Urdu-Page-439

ਓਹੁ ਜੇਵ ਸਾਇਰ ਦੇਇ ਲਹਰੀ ਬਿਜੁਲ ਜਿਵੈ ਚਮਕਏ ॥
 
oh jayv saa-ir day-ay lahree bijul jivai chamka-ay.
 
It is temporary, like the waves on the sea, and the flash of lightning.
 
 اوہُ جیۄ سائِر دےءِ لہریِ بِجُل جِۄےَ چمکۓ  
جیسے سمندر میں لہریں اٹھتی ہیں
 ا ور بجلیاں چمکتی ہیں۔ 
 

 ਹਰਿ ਬਾਝੁ ਰਾਖਾ ਕੋਇ ਨਾਹੀ ਸੋਇ ਤੁਝਹਿ ਬਿਸਾਰਿਆ ॥
 
har baajh raakhaa ko-ay naahee so-ay tujheh bisaari-aa.
 
Without the Lord, there is no other protector, but you have forgotten Him.
 
 ہرِ باجھُ راکھا کوءِ ناہیِ سوءِ تُجھہِ بِسارِیا  
الہٰی نام کے بغیر کوئی محافظ نہیں رہنا ۔ اسے تو نے بھلا رکھا ہے ۔ 

 

 ਸਚੁ ਕਹੈ ਨਾਨਕੁ ਚੇਤਿ ਰੇ ਮਨ ਮਰਹਿ ਹਰਣਾ ਕਾਲਿਆ ॥੧॥
 
sach kahai naanak chayt ray man mareh harnaa kaali-aa. ||1||
 
Nanak speaks the Truth. Reflect upon it, O mind; you shall die, O black deer. ||1||
 
 سچُ کہےَ نانکُ چیتِ رے من مرہِ ہرنھا کالِیا  
سچ کہتا ہے نانک ۔ کہ اے کالے ہرن ( انسان ) خدا کو یاد کردرنہ روحانی موت ہو جائیگی (1) 

 

 ਭਵਰਾ ਫੂਲਿ ਭਵੰਤਿਆ ਦੁਖੁ ਅਤਿ ਭਾਰੀ ਰਾਮ ॥
 
bhavraa fool bhavanti-aa dukh at bhaaree raam.
 
O bumble bee, you wander among the flowers, but terrible pain awaits you.
 
 بھۄرا پھوُلِ بھۄنّتِیا دُکھُ اتِ بھاریِ رام  
اے پھولونں پر منڈ راتے والے بھنورے کی طرح منڈ رانے والے دل اس میں بھاری عذاب پوشیدہ ہے ۔ مضمر ہے ۔ 
 

 ਮੈ ਗੁਰੁ ਪੂਛਿਆ ਆਪਣਾ ਸਾਚਾ ਬੀਚਾਰੀ ਰਾਮ ॥
 
mai gur poochhi-aa aapnaa saachaa beechaaree raam.
 
I have asked my Guru for true understanding.
 
 مےَ گُرُ پوُچھِیا آپنھا ساچا بیِچاریِ رام  
میں نے اپنے مرشد سے پوچھا ہے ۔ اے دل تیری اس حالت کو دیکھ کر کہ مرشد جس کے ذہن میں ہر وقت خدا بستا ہے ۔ 

 

 ਬੀਚਾਰਿ ਸਤਿਗੁਰੁ ਮੁਝੈ ਪੂਛਿਆ ਭਵਰੁ ਬੇਲੀ ਰਾਤਓ ॥
 
beechaar satgur mujhai poochhi-aa bhavar baylee raata-o.
 
I have asked my True Guru for understanding about the bumble bee, who is so involved with the flowers of the garden.
 
 بیِچارِ ستِگُرُ مُجھےَ پوُچھِیا بھۄرُ بیلیِ راتئو  
کہ بھنور امن دنیاوی خوبصورتی اور نعمتوں کے لطف اور مزوں میں مست ہے سچے مرشد نے مجھے سمجھائیا 

 

 ਸੂਰਜੁ ਚੜਿਆ ਪਿੰਡੁ ਪੜਿਆ ਤੇਲੁ ਤਾਵਣਿ ਤਾਤਓ ॥
 
sooraj charhi-aa pind parhi-aa tayl taavan taata-o.
 
When the sun rises, the body will fall, and it will be cooked in hot oil.
 
 سوُرجُ چڑِیا پِنّڈُ پڑِیا تیلُ تاۄنھِ تاتئو  
کہ جب زندگی کی رات ختم ہوجاتی ہے اور نیا سورج چمکنے لگتا ہے تویہ جسم خاک میں مل جاتا ہے تو بدیوں میں ملوث ہونے کی وجہ سے اتنا عذاب پاتا ہے ۔ جتنا دیکچے پائیا ہواتیل گرم کیا جاتا ہے ۔

 

 ਜਮ ਮਗਿ ਬਾਧਾ ਖਾਹਿ ਚੋਟਾ ਸਬਦ ਬਿਨੁ ਬੇਤਾਲਿਆ ॥
 
jam mag baaDhaa khaahi chotaa sabad bin baytaali-aa.
 
You shall be bound and beaten on the road of Death, without the Word of the Shabad, O madman.
 
 جم مگِ بادھا کھاہِ چوٹا سبد بِنُ بیتالِیا  
 اے دنیاوی نعمتوں کے لطف میں مجوس من سبق مرشد کو گنوا کر گناہوں میں ملبوس و محبوس سزا پائے گا

 

 ਸਚੁ ਕਹੈ ਨਾਨਕੁ ਚੇਤਿ ਰੇ ਮਨ ਮਰਹਿ ਭਵਰਾ ਕਾਲਿਆ ॥੨॥
 
sach kahai naanak chayt ray man mareh bhavraa kaali-aa. ||2||
 
Nanak speaks the Truth. Reflect upon it, O mind; you shall die, O bumble bee. ||2||
 
 سچُ کہےَ نانکُ چیتِ رے من مرہِ بھۄرا کالِیا  
نان بیان کرتا ہے ۔ خدا کاد یاد کر درنہ روحانیموت مرجائیگا
 

 ਮੇਰੇ ਜੀਅੜਿਆ ਪਰਦੇਸੀਆ ਕਿਤੁ ਪਵਹਿ ਜੰਜਾਲੇ ਰਾਮ ॥
 
mayray jee-arhi-aa pardaysee-aa kit paveh janjaalay raam.
 
O my stranger soul, why do you fall into entanglements?
 
 میرے جیِئڑِیا پردیسیِیا کِتُ پۄہِ جنّجالے رام  
کت۔ کس لئے ۔ جنجانے ۔ پھندے ۔
 
اے خدا یہ میرے دوسرے ملک (کا) کے رہنے والے دل کیوں اس دنیاوی دولت کے پھندے میں پھنس رہا ہے ۔ 
 

 ਸਾਚਾ ਸਾਹਿਬੁ ਮਨਿ ਵਸੈ ਕੀ ਫਾਸਹਿ ਜਮ ਜਾਲੇ ਰਾਮ ॥
 
saachaa saahib man vasai kee faaseh jam jaalay raam.
 
The True Lord abides within your mind; why are you trapped by the noose of Death?
 
 ساچا ساہِبُ منِ ۄسےَ کیِ پھاسہِ جم جالے رام  
ساچا صاحب۔ سچا۔ صدیوی مالک ۔ پھاسیہہ۔ پھنستا ہے ۔ جسم جالے ۔موت کے پھندے میں۔
 
اگر سچا مالک جو صدیوی اور دئمی ہے تیرے دل میں بستا ہو تو تو اس روحانی موت کے پھندے میں کیوں پھنسے ۔ 
 

 ਮਛੁਲੀ ਵਿਛੁੰਨੀ ਨੈਣ ਰੁੰਨੀ ਜਾਲੁ ਬਧਿਕਿ ਪਾਇਆ ॥
 
machhulee vichhunnee nain runnee jaal baDhik paa-i-aa.
 
The fish leaves the water with tearful eyes, when the fisherman casts his net.
 
 مچھُلیِ ۄِچھُنّنیِ نیَنھ رُنّنیِ جالُ بدھِکِ پائِیا  
وچھونی ۔ جدائی پائی ۔ نین رتی ۔ آنکھوں بھر کےر وئی ۔ بدھک ۔ شکار ۔
 
اے میری جان جیسے ۔ جب شکاری پانی میں جال ڈالتا ہے تو گوشت یا آٹے کے لالچ میں جال میں پھنس جاتی ہے اور آنکھیں بھر کر رونی ہے 
 

 ਸੰਸਾਰੁ ਮਾਇਆ ਮੋਹੁ ਮੀਠਾ ਅੰਤਿ ਭਰਮੁ ਚੁਕਾਇਆ ॥
 
sansaar maa-i-aa moh meethaa ant bharam chukaa-i-aa.
 
The love of Maya is sweet to the world, but in the end, this delusion is dispelled.
 
 سنّسارُ مائِیا موہُ میِٹھا انّتِ بھرمُ چُکائِیا  
سنسار ۔ دنیا ۔ جہاں۔ مائیا موہ میٹھا ۔ دولت کی محبت میٹھی ۔ انت۔ آکر۔ بھرم۔ وہم ۔ بھٹکن ۔ چکائیا۔ ختم کیا۔
 
عین اسی طرح انسان کو دنیاوی کائنات اور دولت کی محبت میٹھی معلوم ہوتی ہے مگر مچھلی کی طرح اسکا وہم وگمان دور ہوجاتا ہے 
 

 ਭਗਤਿ ਕਰਿ ਚਿਤੁ ਲਾਇ ਹਰਿ ਸਿਉ ਛੋਡਿ ਮਨਹੁ ਅੰਦੇਸਿਆ ॥
 
bhagat kar chit laa-ay har si-o chhod manhu andaysi-aa.
 
So perform devotional worship, link your consciousness to the Lord, and dispel anxiety from your mind.
 
 بھگتِ کرِ چِتُ لاءِ ہرِ سِءُ چھوڈِ منہُ انّدیسِیا  
بھگت ۔ الہٰی خوف و محبت ۔ جت لائ ۔د ل لگا کر ۔ ہر سیو۔ خدا سے ۔ چھوڈ منہو ۔ اندیر یا ۔ دل سے خوف دور کر (3)
 
لہذا اے میری جان الہٰی خوف اور محبت میں رہ کر خد کو یاد کر اور دل میں بسا اس طرح سے تمام فکر اور اندیشے ختم ہوجائیں گے ۔ 
 

 ਸਚੁ ਕਹੈ ਨਾਨਕੁ ਚੇਤਿ ਰੇ ਮਨ ਜੀਅੜਿਆ ਪਰਦੇਸੀਆ ॥੩॥
 
sach kahai naanak chayt ray man jee-arhi-aa pardaysee-aa. ||3||
 
Nanak speaks the Truth; focus your consciousness on the Lord, O my stranger soul. ||3||
 
 سچُ کہےَ نانکُ چیتِ رے من جیِئڑِیا پردیسیِیا  
نانک بگوئد ۔ سچ کہ اے دل پر دیسی صدیوی و دائمی خدا کو یاد کر (3) ۔ 

 

 ਨਦੀਆ ਵਾਹ ਵਿਛੁੰਨਿਆ ਮੇਲਾ ਸੰਜੋਗੀ ਰਾਮ ॥
 
nadee-aa vaah vichhunni-aa maylaa sanjogee raam.
 
The rivers and streams which separate may sometime be united again.
 
 ندیِیا ۄاہ ۄِچھُنّنِیا میلا سنّجوگیِ رام  
راہ ۔ راستہ ۔ سنجوگی ۔ قدرتی وچھونیا۔ جدا ہوئے ۔
 
دریا واں تو جدا ہوئے راستے قدرتی نے قسمت نال ہی ہو سکتا ہے ۔ اسی طرح دنیاوی دولت کی محبت میں قیمت سے دوبارہ ملاپ حاسل ہو سکتا ہے ۔ 
 

 ਜੁਗੁ ਜੁਗੁ ਮੀਠਾ ਵਿਸੁ ਭਰੇ ਕੋ ਜਾਣੈ ਜੋਗੀ ਰਾਮ ॥
 
jug jug meethaa vis bharay ko jaanai jogee raam.
 
In age after age, that which is sweet, is full of poison; how rare is the Yogi who understands this.
 
 جُگُ جُگُ میِٹھا ۄِسُ بھرے کو جانھےَ جوگیِ رام  
جگ جگ ۔ ہر زمانے میں ۔ میٹھاوس۔ میٹھازہر۔ جوگی ۔ طارق الدنیا۔
 
کائنات کی محبت گو میٹھی ہے مگر زہر آلودہ ہے اس سے اسنان کی روحانی اور اخلاقی موت واقع ہوجاتی ہے 
 

 ਕੋਈ ਸਹਜਿ ਜਾਣੈ ਹਰਿ ਪਛਾਣੈ ਸਤਿਗੁਰੂ ਜਿਨਿ ਚੇਤਿਆ ॥
 
ko-ee sahj jaanai har pachhaanai satguroo jin chayti-aa.
 
That rare person who centers his consciousness on the True Guru, knows intuitively and realizes the Lord.
 
 کوئیِ سہجِ جانھےَ ہرِ پچھانھےَ ستِگُروُ جِنِ چیتِیا  
سہج ۔ روحانی سکون ۔ ستگر وجن ۔ چیتہا ۔ جس نے سچے مرشد کو یاد کیا ۔
 
ایسا کوئی شاذ و نادر ہی انسان ہے جو سبق مرشد و مرشد کو یاد رکھ کر روحانی سکون پاکر حقیقت اور سچ سمجھ کر الہٰی شراکت حاصل کر تا ہو۔ 
 

 ਬਿਨੁ ਨਾਮ ਹਰਿ ਕੇ ਭਰਮਿ ਭੂਲੇ ਪਚਹਿ ਮੁਗਧ ਅਚੇਤਿਆ ॥
 
bin naam har kay bharam bhoolay pacheh mugaDh achayti-aa.
 
Without the Naam, the Name of the Lord, the thoughtless fools wander in doubt, and are ruined.
 
 بِنُ نام ہرِ کے بھرمِ بھوُلے پچہِ مُگدھ اچیتِیا  
بھرم۔ وہم وگمان۔ بھٹکن ۔ پچیہہ۔ ذلیل وخوار ہوتا ہے ۔ مگدھ ۔ جاہ۔ اچیتا۔ غافل۔
 
الہٰی نام کے بغیر قائنات کی محبت میں بھٹک کر گمراہی میں بیشمار غافل اور بیوقوف ذلیل و خؤار ہوتے ہں۔ 
 

 ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਭਗਤਿ ਨ ਰਿਦੈ ਸਾਚਾ ਸੇ ਅੰਤਿ ਧਾਹੀ ਰੁੰਨਿਆ ॥
 
har naam bhagat na ridai saachaa say ant Dhaahee runni-aa.
 
Those whose hearts are not touched by devotional worship and the Name of the True Lord, shall weep and wail loudly in the end.
 
 ہرِ نامُ بھگتِ ن رِدےَ ساچا سے انّتِ دھاہیِ رُنّنِیا  
دھاہی رنیا۔ آہ وزاری کریگا۔
 
جو الہٰی نام سچ اور حقیقت دل میں نہیں بساتے وہم وگمان میں بھٹک کر بوقت آخرت آہ وزاری و چیخ پکار کرتے ہیں ۔ 
 

 ਸਚੁ ਕਹੈ ਨਾਨਕੁ ਸਬਦਿ ਸਾਚੈ ਮੇਲਿ ਚਿਰੀ ਵਿਛੁੰਨਿਆ ॥੪॥੧॥੫॥
 
sach kahai naanak sabad saachai mayl chiree vichhunni-aa. ||4||1||5||
 
Nanak speaks the Truth; through the True Word of the Shabad, those long separated from the Lord, are united once again. ||4||1||5||
 
 سچُ کہےَ نانکُ سبدِ ساچےَ میلِ چِریِ ۄِچھُنّنِیا  
چری ۔ دیرینہ جدا ہوتے ہوئے ۔
 
نانک بگوید ۔ کہ صدیوی و دائمی خدا ۔ دینہ جدائی پائے ہوے جانداروں کو اپنی صفت صلاح کر ا کے ساتھ ملا لیتے ہیں
 

 ੴ ਸਤਿਗੁਰ ਪ੍ਰਸਾਦਿ ॥
 
ik-oNkaar satgur parsaad.
 
One Universal Creator God. By The Grace Of The True Guru:
 
  ستِگُر پ٘رسادِ  
ایک لازوال خدا ، سچے گرو کے فضل سے سمجھا گیا

 

 ਆਸਾ ਮਹਲਾ ੩ ਛੰਤ ਘਰੁ ੧ ॥
 
aasaa mehlaa 3 chhant ghar 1.
 
Aasaa, Third Mehl, Chhant, First House:
 
 آسا مہلا  چھنّت گھرُ ੧  
 
 ਹਮ ਘਰੇ ਸਾਚਾ ਸੋਹਿਲਾ ਸਾਚੈ ਸਬਦਿ ਸੁਹਾਇਆ ਰਾਮ ॥
 
ham gharay saachaa sohilaa saachai sabad suhaa-i-aa raam.
 
Within my home, the true wedding songs of rejoicing are sung; my home is adorned with the True Word of the Shabad.
 
 ہم گھرے ساچا سوہِلا ساچےَ سبدِ سُہائِیا رام  
ہم گھرے ۔ ہمارے دلمیں۔ ساچاا سوہلا۔ سچی ۔ تعریف ۔ حمدوثناہ ۔ ساچے سبد ۔ سچے کلام ۔ سہائیا۔ سوہنا ہوا۔ دھن پر ۔ زوجہ و خاوند۔ انسان اور خدا۔
 
میرے دلمیں الہٰی حمدوثناہ کے نغمے کو کلام مرشد نے رہنمائی کرکے میرے دل کو نیک افعال خوبروئی عنایت کردی اور 
 

 ਧਨ ਪਿਰ ਮੇਲੁ ਭਇਆ ਪ੍ਰਭਿ ਆਪਿ ਮਿਲਾਇਆ ਰਾਮ ॥
 
Dhan pir mayl bha-i-aa parabh aap milaa-i-aa raam.
 
The soul-bride has met her Husband Lord; God Himself has consummated this union.
 
 دھن پِر میلُ بھئِیا پ٘ربھِ آپِ مِلائِیا رام  
خدا نے خؤد ملاپ عنایت کر دیا ۔ جیسے زوجہ اور خاوند ملاپ ہوتا ہے ۔ 
 

 ਪ੍ਰਭਿ ਆਪਿ ਮਿਲਾਇਆ ਸਚੁ ਮੰਨਿ ਵਸਾਇਆ ਕਾਮਣਿ ਸਹਜੇ ਮਾਤੀ ॥
 
parabh aap milaa-i-aa sach man vasaa-i-aa kaaman sehjay maatee.
 
God Himself has consummated this union; the soul-bride enshrines Truth within her mind, intoxicated with peaceful poise.
 
 پ٘ربھِ آپِ مِلائِیا سچُ منّنِ ۄسائِیا کامنھِ سہجے ماتیِ  
سچ من وسائیا۔ سچاور حقیقت دل میں بسی ۔ مراد خدا دلمیں بسا۔ کامن۔ عورت۔ مراد انسان ۔ سہجے ماتی ۔ پر سکون ہوئی ۔
 
خدا نے خود ملاپ بخشا حقیقت اور سچ جس دل میں انسانی زینت عنایت کی
 

 ਗੁਰ ਸਬਦਿ ਸੀਗਾਰੀ ਸਚਿ ਸਵਾਰੀ ਸਦਾ ਰਾਵੇ ਰੰਗਿ ਰਾਤੀ ॥
 
gur sabad seegaaree sach savaaree sadaa raavay rang raatee.
 
Embellished with the Word of the Guru's Shabad, and beautified with Truth, she enjoys her Beloved forever, imbued with His Love.
 
 گُر سبدِ سیِگاریِ سچِ سۄاریِ سدا راۄے رنّگِ راتیِ  
 سبد ریگاری ۔ کلام سے سجائی ۔ مراد سبق مرشد دلمیں بسائیا۔ سچ سواری ۔ سچ سے درست کی ۔ راوے ۔ زہر کار لائے ۔ رنگ ۔ رپیم ۔ راتی ۔محو۔
 
جس سے صدیوی اور دائمی الہٰی پریم پیار میں محو ومجذوب ہوگیا۔ 
 

 ਆਪੁ ਗਵਾਏ ਹਰਿ ਵਰੁ ਪਾਏ ਤਾ ਹਰਿ ਰਸੁ ਮੰਨਿ ਵਸਾਇਆ ॥
 
aap gavaa-ay har var paa-ay taa har ras man vasaa-i-aa.
 
Eradicating her ego, she obtains her Husband Lord, and then, the sublime essence of the Lord dwells within her mind.
 
 آپُ گۄاۓ ہرِ ۄرُ پاۓ تا ہرِ رسُ منّنِ ۄسائِیا  
آپ ۔ خودی۔ خوئشتا ۔ ہر ور۔ خاوند خدا۔ سھپلیؤ۔ کامیاب ۔
 
خودی خوئشتا مٹا کر الہٰی ملاپ حاصل ہوتا ہے تبھی الہٰی لطف کا مزہ دل محسوس کرتا ہے ۔ 
 

 ਕਹੁ ਨਾਨਕ ਗੁਰ ਸਬਦਿ ਸਵਾਰੀ ਸਫਲਿਉ ਜਨਮੁ ਸਬਾਇਆ ॥੧॥
 
kaho naanak gur sabad savaaree safli-o janam sabaa-i-aa. ||1||
 
Says Nanak, fruitful and prosperous is her entire life; she is embellished with the Word of the Guru's Shabad. ||1||
 
 کہُ نانک گُر سبدِ سۄاریِ سپھلِءُ جنمُ سبائِیا  
سبائیا۔ ساری زندگی (1)
 
اے نانک۔ بتادے کہ کلام مرشد کی برکت سے انسان کی روحانی زندگی اخلاقی طورپر نیک سیرت پاک اور ہمیشہ کامیاب رہتی ہے (1)
 

 ਦੂਜੜੈ ਕਾਮਣਿ ਭਰਮਿ ਭੁਲੀ ਹਰਿ ਵਰੁ ਨ ਪਾਏ ਰਾਮ ॥
 
doojrhai kaaman bharam bhulee har var na paa-ay raam.
 
The soul-bride who has been led astray by duality and doubt, does not attain her Husband Lord.
 
 دوُجڑےَ کامنھِ بھرمِ بھُلیِ ہرِ ۄرُ ن پاۓ رام  
دوسری دنیاوی عشق و محبتمیں اور وہم و گمان کی گمراہی میں الہٰی ملاپ حاصل نہیں کر سکتا ۔ 

 

 ਕਾਮਣਿ ਗੁਣੁ ਨਾਹੀ ਬਿਰਥਾ ਜਨਮੁ ਗਵਾਏ ਰਾਮ ॥
 
kaaman gun naahee birthaa janam gavaa-ay raam.
 
That soul-bride has no virtue, and she wastes her life in vain.
 
 کامنھِ گُنھُ ناہیِ بِرتھا جنمُ گۄاۓ رام  
برتھا۔ بیفائدہ ۔
 
اس کے دل میں کوئی وصف پیدا نہیں ہوتا زندگی بیکار گذر جاتی ہے ۔ 
 

 ਬਿਰਥਾ ਜਨਮੁ ਗਵਾਏ ਮਨਮੁਖਿ ਇਆਣੀ ਅਉਗਣਵੰਤੀ ਝੂਰੇ ॥
 
birthaa janam gavaa-ay manmukh i-aanee a-uganvantee jhooray.
 
The self-willed, ignorant and disgraceful manmukh wastes her life in vain, and in the end, she comes to grief.
 
 بِرتھا جنمُ گۄاۓ منمُکھِ اِیانھیِ ائُگنھۄنّتیِ جھوُرے  
ایانی۔ انجان ۔ منمکھ (مرید من ) دوجڑے ۔ خدا کے علاوہ ۔ دوسرا ۔ بھرم ۔ وہم وگمان ۔ بھولی ۔ گمراہ۔ جھورے ۔ پھتاوا۔ فکر کرنا۔
 
من کا مرید انسان نادان بد اوصاف سے مخمور ہونے کی وجہ سےد ل ہی دل میں غم وفکر میں محبوس
 ہوجاتا ہے ۔ 
 

 ਆਪਣਾ ਸਤਿਗੁਰੁ ਸੇਵਿ ਸਦਾ ਸੁਖੁ ਪਾਇਆ ਤਾ ਪਿਰੁ ਮਿਲਿਆ ਹਦੂਰੇ ॥
 
aapnaa satgur sayv sadaa sukh paa-i-aa taa pir mili-aa hadooray.
 
But when she serves her True Guru, she obtains peace, and then she meets her Husband Lord, face to face.
 
 آپنھا ستِگُرُ سیۄِ سدا سُکھُ پائِیا تا پِرُ مِلِیا ہدوُرے  
سیو ۔ خدمت۔ حدورے ۔ حاضر۔ ساتھ ۔
 
سچے مرشد کی خدمت سے ہمیشہ آرام و آسائش پاتا ہے ۔ روحانی سکون خوشباشی خدا کا ساتھ ملتا ہے ۔ 
 

 ਦੇਖਿ ਪਿਰੁ ਵਿਗਸੀ ਅੰਦਰਹੁ ਸਰਸੀ ਸਚੈ ਸਬਦਿ ਸੁਭਾਏ ॥
 
daykh pir vigsee andrahu sarsee sachai sabad subhaa-ay.
 
Beholding her Husband Lord, she blossoms forth; her heart is delighted, and she is beautified by the True Word of the Shabad.
 
 دیکھِ پِرُ ۄِگسیِ انّدرہُ سرسیِ سچےَ سبدِ سُبھاۓ  
وگسی ۔ خوش۔ سر سی ۔ پر لطف۔ سبد۔ کلام ۔ سبھائے ۔ پریم پیار میں (2)
 
الہٰی دیدار سے دل کھلتا ہے روحانی سکون الہٰی حمدوثناہ اور الہٰی رپیم پیار میں انسان محو ومجذوب رہتا ہے ۔
 

 ਨਾਨਕ ਵਿਣੁ ਨਾਵੈ ਕਾਮਣਿ ਭਰਮਿ ਭੁਲਾਣੀ ਮਿਲਿ ਪ੍ਰੀਤਮ ਸੁਖੁ ਪਾਏ ॥੨॥
 
naanak vin naavai kaaman bharam bhulaanee mil pareetam sukh paa-ay. ||2||
 
O Nanak, without the Name, the soul-bride wanders around, deluded by doubt. Meeting her Beloved, she obtains peace. ||2||
 
 نانک ۄِنھُ ناۄےَ کامنھِ بھرمِ بھُلانھیِ مِلِ پ٘ریِتم سُکھُ پاۓ  
اے نانک الہٰی نام کے بغیر انسان وہم وگمان اور گمراہی میں رہتا ہے ۔ پیارے خدا سے مل کر روحانی سکون پاتا ہے (2)