Urdu-Page-366

ੴ ਸਤਿਗੁਰ ਪ੍ਰਸਾਦਿ ॥
ik-oNkaar satgur parsaad.
One eternal God. Realized by the grace of the true Guru:
  ستِگُر پ٘رسادِ  
ایک ابدی خدا۔ حقیقی گرو کے فضل سے محسوس ہوا

 ਰਾਗੁ ਆਸਾ ਘਰੁ ੨ ਮਹਲਾ ੪ ॥
raag aasaa ghar 2 mehlaa 4.
Raag Aasaa, Second Beat, Fourth Guru:
 راگُ آسا گھرُ  مہلا   
 ਕਿਸ ਹੀ ਧੜਾ ਕੀਆ ਮਿਤ੍ਰ ਸੁਤ ਨਾਲਿ ਭਾਈ ॥
kis hee Dharhaa kee-aa mitar sut naal bhaa-ee.
Some form alliances with friends, children and siblings.
 
ਕਿਸੇ ਮਨੁੱਖ ਨੇ ਆਪਣੇ ਮਿੱਤਰ ਨਾਲਪੁੱਤਰ ਨਾਲਭਰਾ ਨਾਲ ਸਾਥ ਗੰਢਿਆ ਹੋਇਆ ਹੈ,
 کِس ہیِ دھڑا کیِیا مِت٘ر سُت نالِ بھائیِ  
ست۔ بیٹا۔ فرزند۔
کسی نے اپنے دوست ، بیٹے ، بھائی کو ساتھی سنایئیا ہوا ہے

 ਕਿਸ ਹੀ ਧੜਾ ਕੀਆ ਕੁੜਮ ਸਕੇ ਨਾਲਿ ਜਵਾਈ ॥
kis hee Dharhaa kee-aa kurham sakay naal javaa-ee.
Some form alliances with in-laws and relatives (son in-law).
 
ਕਿਸੇ ਨੇ ਆਪਣੇ ਸੱਕੇ ਕੁੜਮ ਨਾਲਜਵਾਈ ਨਾਲ ਧੜਾ ਬਣਾਇਆ ਹੋਇਆ ਹੈ,
 کِس ہیِ دھڑا کیِیا کُڑم سکے نالِ جۄائیِ 
۔ کسی نے اپنے کڑم اور جوانی کو ساتھی بنا رکھا ہے ۔ 

 ਕਿਸ ਹੀ ਧੜਾ ਕੀਆ ਸਿਕਦਾਰ ਚਉਧਰੀ ਨਾਲਿ ਆਪਣੈ ਸੁਆਈ ॥
kis hee Dharhaa kee-aa sikdaar cha-uDhree naal aapnai su-aa-ee.
Some form alliances with chiefs and leaders for their own selfish motives.
 
ਕਿਸੇ ਮਨੁੱਖ ਨੇ ਆਪਣੀ ਗ਼ਰਜ਼ ਦੀ ਖ਼ਾਤਰ ਪਿੰਡ ਦੇ ਸਰਦਾਰ ਨਾਲ ਚੌਧਰੀ ਨਾਲ ਧੜਾ ਬਣਾਇਆ ਹੋਇਆ ਹੈ;
 کِس ہیِ دھڑا کیِیا سِکدار چئُدھریِ نالِ آپنھےَ سُیائیِ  
سکدار۔ سردار۔ سوائی ۔ خود غرضی مطلب ۔
کسی نے کسی سردار اور چوہدری سے اپنی خود غرضی کے لئے ساتھ بنا رکھا ہے ۔ 

 ਹਮਾਰਾ ਧੜਾ ਹਰਿ ਰਹਿਆ ਸਮਾਈ ॥੧॥
hamaaraa Dharhaa har rahi-aa samaa-ee. ||1||
But my alliance is with God, who is pervading everywhere. ||1||
 
ਪਰ ਮੇਰਾ ਸਾਥੀ ਉਹ ਪਰਮਾਤਮਾ ਹੈ ਜੋ ਸਭ ਥਾਈਂ ਮੌਜੂਦ ਹੈ  
 ہمارا دھڑا ہرِ رہِیا سمائیِ  
ہر خدا۔ رب
مگر میرا ساتھی خدا ہے جو ہر جا ہے ۔ 

 ਹਮ ਹਰਿ ਸਿਉ ਧੜਾ ਕੀਆ ਮੇਰੀ ਹਰਿ ਟੇਕ ॥
ham har si-o Dharhaa kee-aa mayree har tayk.
I have formed my alliance with God and He is my only support.
 
ਅਸਾਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨਾਲ ਸਾਥ ਬਣਾਇਆ ਹੈਪਰਮਾਤਮਾ ਹੀ ਮੇਰਾ ਆਸਰਾ ਹੈ
 ہم ہرِ سِءُ دھڑا کیِیا میریِ ہرِ ٹیک  
ٹیک ۔آسرا ۔
ہم نے خدا کو اپنا ساتھی بنایا ہے اور خدا کا ہی آسرا اور سہارا ہے

 ਮੈ ਹਰਿ ਬਿਨੁ ਪਖੁ ਧੜਾ ਅਵਰੁ ਨ ਕੋਈ ਹਉ ਹਰਿ ਗੁਣ ਗਾਵਾ ਅਸੰਖ ਅਨੇਕ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥
mai har bin pakh Dharhaa avar na ko-ee ha-o har gun gaavaa asaNkh anayk. ||1|| rahaa-o.
Other than God, I have no other faction or alliance and I keep singing of His countless and endless glorious virtues. ||1||Pause||
 
ਪਰਮਾਤਮਾ ਤੋਂ ਬਿਨਾ ਮੇਰਾ ਹੋਰ ਕੋਈ ਪੱਖ ਨਹੀਂਮੈਂ ਉਸ ਦੇ ਹੀ ਅਨੇਕਾਂ ਤੇ ਅਣਗਿਣਤ ਗੁਣ ਗਾਂਦਾ ਰਹਿੰਦਾ ਹਾਂ  ਰਹਾਉ 
 مےَ ہرِ بِنُ پکھُ دھڑا اۄرُ ن کوئیِ ہءُ ہرِ گُنھ گاۄا اسنّکھ انیک  رہاءُ  
اسنکھ بیشمار (1) رہاؤ۔ جاہے ۔ رخصت ہو جاتے ہیں۔
خدا کے علاوہ میرا کوئی ساتھی نہیں۔ ۔ مین الہٰی صفت صلاح اور اوصاف سرائی کرتار رہتا ہوں

 ਜਿਨ੍ਹ੍ਹ ਸਿਉ ਧੜੇ ਕਰਹਿ ਸੇ ਜਾਹਿ ॥
jinH si-o Dharhay karahi say jaahi.
They ultimately depart from the world, with whom people form alliances
 
ਲੋਕ ਜਿਨ੍ਹਾਂ ਬੰਦਿਆਂ ਨਾਲ ਧੜੇ ਗੰਢਦੇ ਹਨ ਉਹ ਆਖ਼ਰ ਜਗਤ ਤੋਂ ਕੂਚ ਕਰ ਜਾਂਦੇ ਹਨ l
 جِن٘ہ٘ہ سِءُ دھڑے کرہِ سے جاہِ 
لوگ جن کو ساتھی بناتے وہ اس جہاں سے چلے جاتے ہیں

 ਝੂਠੁ ਧੜੇ ਕਰਿ ਪਛੋਤਾਹਿ ॥
jhooth Dharhay kar pachhotaahi.
Making false alliances, people repent and regret in the end.
 
ਕੂੜੀਆਂ ਪਾਰਟੀਆਂ ਬਣਾ ਕੇ ਬੰਦੇ ਓੜਕ ਨੂੰ ਅਫਸੋਸ ਕਰਦੇ ਹਨ
 جھوُٹھُ دھڑے کرِ پچھوتاہِ 
اور جھوٹے ساتھی بنا کر پچھتاتے ہیں دل میں فریب اور دھوکا ہے سکون نہیں پاتے ۔

 ਥਿਰੁ ਨ ਰਹਹਿ ਮਨਿ ਖੋਟੁ ਕਮਾਹਿ ॥
thir na raheh man khot kamaahi.
Those who make factions also do not live forever and therefore, unnecessarily keep deceiving themselves and others.
 
ਧੜੇ ਬਣਾਣ ਵਾਲੇ ਆਪ ਭੀ ਸਦਾ ਟਿਕੇ ਨਹੀਂ ਰਹਿੰਦੇਵਿਅਰਥ ਹੀ ਧੜਿਆਂ ਦੀ ਖ਼ਾਤਰ ਆਪਣੇ ਮਨ ਵਿਚ ਠੱਗੀਫ਼ਰੇਬ ਕਰਦੇ ਰਹਿੰਦੇ ਹਨ 
 تھِرُ ن رہہِ منِ کھوٹُ کماہِ 
جو لوگ دھڑے بندی کرتے ہیں وہ ہمیشہ کے لئے نہیں زندہ رہتے ہیں اور اسی لئے غیر ضروری طور پر خود اور دوسروں کو دھوکہ دیتے رہتے ہیں۔

 ਹਮ ਹਰਿ ਸਿਉ ਧੜਾ ਕੀਆ ਜਿਸ ਕਾ ਕੋਈ ਸਮਰਥੁ ਨਾਹਿ ॥੨॥
ham har si-o Dharhaa kee-aa jis kaa ko-ee samrath naahi. ||2||
But I have formed pact only with God whom no one can equal in power. ||2||
ਪਰ ਮੈਂ ਤਾਂ ਉਸ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨਾਲ ਆਪਣਾ ਸਾਥ ਬਣਾਇਆ ਹੈ ਜਿਸ ਦੇ ਬਰਾਬਰ ਦੀ ਤਾਕਤ ਰੱਖਣ ਵਾਲਾ ਹੋਰ ਕੋਈ ਨਹੀਂ ਹੈ 
 ہم ہرِ سِءُ دھڑا کیِیا جِس کا کوئیِ سمرتھُ ناہِ  
سمرتھ ۔ ثانی ۔ برابر۔
لیکن میں نے صرف خدا کے ساتھ معاہدہ کیا ہے جس کی طاقت میں کوئی برابر نہیں ہوسکتا۔
۔

 ਏਹ ਸਭਿ ਧੜੇ ਮਾਇਆ ਮੋਹ ਪਸਾਰੀ ॥
ayh sabh Dharhay maa-i-aa moh pasaaree.
All these alliances are mere extensions of the love of Maya.
 
ਇਹ ਸਾਰੇ ਧੜੇ ਮਾਇਆ ਦਾ ਖਿਲਾਰਾ ਹਨ ਮੋਹ ਦਾ ਖਿਲਾਰਾ ਹਨ
 ایہ سبھِ دھڑے مائِیا موہ پساریِ  
مایئیا موہ ۔ دنیاوی دولت کی محبت ۔
یہ سارے ساتھ دنیاوی دؤلت کی خاطرہیں۔ 

 ਮਾਇਆ ਕਉ ਲੂਝਹਿ ਗਾਵਾਰੀ ॥
maa-i-aa ka-o loojheh gaavaaree.
For the sake of Maya, ignorant people keep clashing with each other.
 
ਮੂਰਖ ਲੋਕ ਮਾਇਆ ਦੀ ਖ਼ਾਤਰ ਹੀ (ਆਪੋ ਵਿਚਲੜਦੇ ਰਹਿੰਦੇ ਹਨ
 مائِیا کءُ لوُجھہِ گاۄاریِ  
لوجھیہہ۔ لالچ کرتے ہیں۔ اس کے لئے لڑتے ہیں۔ گواری ۔ جاہل۔
جا ہل لوگ دؤلت کے لالچ میں لڑتے اور جھگڑتے ہیں۔ 

 ਜਨਮਿ ਮਰਹਿ ਜੂਐ ਬਾਜੀ ਹਾਰੀ ॥
janam mareh joo-ai baajee haaree.
They lose the game of life and fall in the cycles of birth and death.
 
ਉਹ ਮੁੜ ਮੁੜ ਜੰਮਦੇ ਹਨ ਮਰਦੇ ਹਨਉਹ ਜੂਏ ਵਿਚ ਮਨੁੱਖਾ ਜੀਵਨ ਦੀ ਬਾਜ਼ੀ ਹਾਰ ਜਾਂਦੇ ਹਨ l 
 جنمِ مرہِ جوُئےَ باجیِ ہاریِ 
اس لئے تناسخ میں پڑتے ہیں اور زندگی کا کھیل ہا ر کر چلے جاتے ہیں

 ਹਮਰੈ ਹਰਿ ਧੜਾ ਜਿ ਹਲਤੁ ਪਲਤੁ ਸਭੁ ਸਵਾਰੀ ॥੩॥
hamrai har Dharhaa je halat palat sabh savaaree. ||3||
But my alliance is with God, who embellishes my this and the next world. ||3||
 
ਪਰ ਮੇਰੇ ਨਾਲ ਤਾਂ ਸਾਥੀ ਹੈ ਪਰਮਾਤਮਾ ਜੋ ਮੇਰਾ ਲੋਕ ਤੇ ਪਰਲੋਕ ਸਭ ਕੁਝ ਸਵਾਰਨ ਵਾਲਾ ਹੈ  
 ہمرےَ ہرِ دھڑا جِ ہلتُ پلتُ سبھُ سۄاریِ  
ہلت پلت۔ حال اور مستقبل۔ (3)
 ہمرا ساتھی خدا ہے جس نے حال و مستقبل دونوں سنوارنے والاہے ۔

 ਕਲਿਜੁਗ ਮਹਿ ਧੜੇ ਪੰਚ ਚੋਰ ਝਗੜਾਏ ॥
kalijug meh Dharhay panch chor jhagrhaa-ay.
In Kalyug, the five vices instigate alliances and conflicts.
 
ਕਲਜੁਗ ਅੰਦਰ ਪੰਜ ਤਸਕਰ ਪਾਰਟੀਆਂ ਅਤੇ ਫਸਾਦ ਖੜੇ ਕਰਦੇ ਹਨ
 کلِجُگ مہِ دھڑے پنّچ چور جھگڑاۓ  
پنچ چور۔ انسانیت کے لٹیرے ۔ احساسات بد۔ شہوت۔ غصہ۔ لالچ۔ محبت غرور ۔
اس مشینری کے لڑائی جھگڑے کے زمانے میں انسانوں کے ساتھ اور فرقے ان پانچ اخلاقی دشمنوں کی وجہ سے بنتے ہیں

 ਕਾਮੁ ਕ੍ਰੋਧੁ ਲੋਭੁ ਮੋਹੁ ਅਭਿਮਾਨੁ ਵਧਾਏ ॥
kaam kroDh lobh moh abhimaan vaDhaa-ay.
Lust, anger, greed, emotional attachment and self-conceit have increased.
 
ਕਾਮਗੁੱਸਾਲਾਲਚਸੰਸਾਰੀ ਮਮਤਾ ਅਤੇ ਹੰਕਾਰ ਵਧੇਰੇ ਹੋ ਗਏ ਹਨ
 کامُ ک٘رودھُ لوبھُ موہُ ابھِمانُ ۄدھاۓ 
جو اس طرح سے ہیں۔ شہوت ۔ غصہ۔ لالچ ۔ محبت اور غرورانسان کو آپس میں جھگراتے ہیں۔

 ਜਿਸ ਨੋ ਕ੍ਰਿਪਾ ਕਰੇ ਤਿਸੁ ਸਤਸੰਗਿ ਮਿਲਾਏ ॥
jis no kirpaa karay tis satsang milaa-ay.
One on whom God shows His mercy, he gets united with the the holy congregation.
 
ਜਿਸ ਮਨੁੱਖ ਉਤੇ ਪਰਮਾਤਮਾ ਮੇਹਰ  ਰਦਾ ਹੈ ਉਸ ਨੂੰ ਸਾਧ ਸੰਗਤਿ ਵਿਚ ਮਿਲਾਂਦਾ ਹੈ
 جِس نو ک٘رِپا کرے تِسُ ستسنّگِ مِلاۓ  
ست ۔ سچے ۔پاکدامن۔ سنگ۔ ساتھی۔
جس پر الہٰی رحمت ہے اسے سچے ساتھی ملاتا ہے

 ਹਮਰਾ ਹਰਿ ਧੜਾ ਜਿਨਿ ਏਹ ਧੜੇ ਸਭਿ ਗਵਾਏ ॥੪॥
hamraa har Dharhaa jin ayh Dharhay sabh gavaa-ay. ||4||
My alliance is with God who has made me abandon all other worldly factions. |4|
 
(ਹੇ ਭਾਈ!) ਮੇਰੀ ਮਦਦ ਤੇ ਪਰਮਾਤਮਾ ਆਪ ਹੈ ਜਿਸ ਨੇ (ਮੇਰੇ ਅੰਦਰੋਂਇਹ ਸਾਰੇ ਧੜੇ ਮੁਕਾ ਦਿੱਤੇ ਹੋਏ ਹਨ  
 ہمرا ہرِ دھڑا جِنِ ایہ دھڑے سبھِ گۄاۓ 
مگر میرا وہ ساتھی ہے جو سب فرقے اور تفرقے مٹارکھ ہیں۔ 

 ਮਿਥਿਆ ਦੂਜਾ ਭਾਉ ਧੜੇ ਬਹਿ ਪਾਵੈ ॥
mithi-aa doojaa bhaa-o Dharhay bahi paavai.
False love of duality in the mind of the people creates alliances.
 ਮਾਇਆ ਦਾ ਝੂਠਾ ਪਿਆਰ ਮਨੁੱਖ ਦੇ ਅੰਦਰ ਟਿਕ ਕੇ ਧੜੇਬਾਜ਼ੀਆਂ ਪੈਦਾ ਕਰਦਾ ਹੈ 
 مِتھِیا دوُجا بھاءُ دھڑے بہِ پاۄےَ  
متھیا۔ جھوٹا۔۔ دوجا بھاؤ۔ غیروں سے محبت۔ دنیاوی دؤلت کی محبت
دنیاوی دؤلت کی محبت جھوٹی ہے ۔ جو فرقہ وار یت پیدا کرتا ہے

 ਪਰਾਇਆ ਛਿਦ੍ਰੁ ਅਟਕਲੈ ਆਪਣਾ ਅਹੰਕਾਰੁ ਵਧਾਵੈ ॥
paraa-i-aa chhidar atkalai aapnaa ahaNkaar vaDhaavai.
One makes wild guesses about the fault of others and multiply his own ego by thinking himself superior than others.
 
ਮਨੁੱਖ ਹੋਰਨਾਂ ਦਾ ਐਬ ਜਾਚਦਾ ਫਿਰਦਾ ਹੈ ਤੇ ਆਪਣੇ ਆਪ ਨੂੰ ਚੰਗਾ ਸਮਝ ਕੇ ਆਪਣਾ ਅਹੰਕਾਰ ਵਧਾਂਦਾ ਹੈ
 پرائِیا چھِد٘ر اٹکلےَ آپنھا اہنّکارُ ۄدھاۄےَ 
پرایئیا ۔ بیگانہ۔ چھدر۔عیب ۔ برائی ۔ اٹکلے ۔ اندازہ لگاتا ہے ۔ اہنکار۔ غرور ۔ گھمنڈ ۔
اس سے بیگانگی ۔ عیب ۔انداے اور غرور بڑھتا ہے

 ਜੈਸਾ ਬੀਜੈ ਤੈਸਾ ਖਾਵੈ ॥
jaisaa beejai taisaa khaavai.
As one sows, so does one reap.
 
ਜਿਹੋ ਜਿਹਾ ਬੀ ਬੀਜਦਾ ਹੈ ਉਹੋ ਜਿਹਾ ਫਲ ਹਾਸਲ ਕਰਦਾ ਹੈ
 جیَسا بیِجےَ تیَسا کھاۄےَ 
جیسا بوتا ہے انسان ویسا کاٹتا یا کھاتا ہے یعنی اعمال کے مطابق نتائج نیک و بد میں برآمد ہوتے ہین۔

 ਜਨ ਨਾਨਕ ਕਾ ਹਰਿ ਧੜਾ ਧਰਮੁ ਸਭ ਸ੍ਰਿਸਟਿ ਜਿਣਿ ਆਵੈ ॥੫॥੨॥੫੪॥
 jan naanak kaa har Dharhaa Dharam sabh sarisat jin aavai. ||5||2||54||
The alliance of Nanak is with righteousness and God with whose power one conquering the entire world. ||5||2||54||
 
ਨਾਨਕ ਦਾ ਸਾਥੀ ਤਾਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਅਤੇ ਸੱਚਾਈ ਹੈ ਜਿਸ ਨਾਲ ਮਨੁੱਖ ਸਾਰੀ ਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀ ਨੂੰ ਜਿੱਤ ਕੇ  ਸਕਦਾ ਹੈ ੫੪
 جن نانک کا ہرِ دھڑا دھرمُ سبھ س٘رِسٹِ جِنھِ آۄےَ 
دھرم۔ حق شناشی ۔ فرض ۔ جن۔ جیت۔ فتح۔
خادم نانک کا ساتھی ۔ خدا ہے دھرم ۔ یعنی حق شناسی نے تمام عالم پرفتح پائی ہے

 ਆਸਾ ਮਹਲਾ ੪ ॥
aasaa mehlaa 4.
Raag Aasaa, Fourth Guru:
 آسا مہلا   
 ਹਿਰਦੈ ਸੁਣਿ ਸੁਣਿ ਮਨਿ ਅੰਮ੍ਰਿਤੁ ਭਾਇਆ ॥
hirdai sun sun man amrit bhaa-i-aa.
One whose mind is pleased with the ambrosial nectar of God’s Name by repeatedly listening to the Guru’s word.
 
ਗੁਰੂ ਦੀ ਬਾਣੀ ਸੁਣ ਕੇ ਜਿਸ ਮਨੁੱਖ ਦੇ ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੇਣ ਵਾਲਾ ਨਾਮਜਲ ਪਿਆਰਾ ਲੱਗਣ ਲੱਗ ਪੈਂਦਾ ਹੈ
 ہِردےَ سُنھِ سُنھِ منِ انّم٘رِتُ بھائِیا  
ہر دے ، دل میں انمرت۔ آب حیات ۔ بھایئیا ۔ پیار ۔ معلوم ہوا۔
کلام مرشد جو اب حیات ہے سن سن کر دل کو پیاری لگی

 ਗੁਰਬਾਣੀ ਹਰਿ ਅਲਖੁ ਲਖਾਇਆ ॥੧॥
gurbaanee har alakh lakhaa-i-aa. ||1||
Through the Guru’s word, he comprehends the incomprehensible God.||1||
ਗੁਰਬਾਣੀ ਦੀ ਬਰਕਤਿ ਨਾਲ ਉਹ ਮਨੁੱਖ ਅਦ੍ਰਿਸ਼ਟ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਦਰਸ਼ਨ ਕਰ ਲੈਂਦਾ ਹੈ 
 گُربانھیِ ہرِ الکھُ لکھائِیا  
گربانی ۔ کلام مرشد۔ ہرالکھ۔ جس کی قدروقیمت کا انداہ نہ لگایئیا جا سکے ۔ لکھایئیا ۔ اس کا دیدار کرایئیا سمجھایئیا ۔
اور اس سےناقابل دیدار کا دیدار ہوتا ہے ۔ 

 ਗੁਰਮੁਖਿ ਨਾਮੁ ਸੁਨਹੁ ਮੇਰੀ ਭੈਨਾ ॥
gurmukh naam sunhu mayree bhainaa.
O’ my sister, follow the Guru’s teachings and listen to God’s praises.
 
ਹੇ ਮੇਰੀ ਭੈਣੋਗੁਰੂ ਦੀ ਸਰਨ ਪੈ ਕੇ ਉਸ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਸੁਣਿਆ ਕਰੋ,
 گُرمُکھِ نامُ سُنہُ میریِ بھیَنا  
(1)گورمکھ۔ مرشد سے ۔نام سنو۔ سچ اور الہٰی نام سنہو۔ میری بھینا۔ میری بہنو۔ میری ہمزاز انسانوں کے
اے بھائیوں مرشد کے وسیلے سے الہٰی نام یعنی سچا کلام سنو۔ 

 ਏਕੋ ਰਵਿ ਰਹਿਆ ਘਟ ਅੰਤਰਿ ਮੁਖਿ ਬੋਲਹੁ ਗੁਰ ਅੰਮ੍ਰਿਤ ਬੈਨਾ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥
ayko rav rahi-aa ghat antar mukh bolhu gur amrit bainaa. ||1|| rahaa-o.
God alone is pervading in our heart; therefore utter the ambrosial words of the Guru.||1||Pause||
 
ਜੋ ਆਪ ਹੀ ਹਰੇਕ ਜੀਵ ਵਿਚ ਮੌਜੂਦ ਹੈ ਮੂੰਹ ਨਾਲ ਗੁਰੂ ਦੇ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੇਣ ਵਾਲੇ ਸ਼ਬਦ ਬੋਲਿਆ ਕਰੋ l ਰਹਾਉ 
 ایکو رۄِ رہِیا گھٹ انّترِ مُکھِ بولہُ گُر انّم٘رِت بیَنا  رہاءُ  
ایکو ردر ہیا گھٹ ۔ انتر ۔ ہر دل میں واحد خدا بستا ہے ۔ مکہہ زبان سے ۔ بینا۔ بچن ۔ کلام (1) رہاؤ۔
اور زبان سے روحانی زدگی بنانے والا کلام مرشد بولو کہو (1) رہاؤ۔ میری دل وجان میں بھاری پیار اور ملاپ کے لئے تڑپ ہے 

 ਮੈ ਮਨਿ ਤਨਿ ਪ੍ਰੇਮੁ ਮਹਾ ਬੈਰਾਗੁ ॥
mai man tan paraym mahaa bairaag.
My mind and body are filled with love for God and the pains of separation
ਮੇਰੀ ਆਤਮਾ ਤੇ ਦੇਹਿ ਅੰਦਰ ਪ੍ਰਭੂਪ੍ਰੀਤ ਅਤੇ ਪਰਮ ਉਂਦਾਸੀ ਹੈ
 مےَ منِ تنِ پ٘ریمُ مہا بیَراگُ  
ویراگ۔ جدائی ۔ تڑپ۔ پریم۔ پیار ۔
میرا دماغ اور جسم خدا سے پیار اور علیحدگی کے درد سے لبریز ہیں

 ਸਤਿਗੁਰੁ ਪੁਰਖੁ ਪਾਇਆ ਵਡਭਾਗੁ ॥੨॥
satgur purakh paa-i-aa vadbhaag. ||2||
By great fortune, I have met the True Guru, the embodiment of God. ||2||
ਪਰਮ ਚੰਗੇ ਨਸੀਬਾਂ ਦੁਆਰਾ ਮੈਨੂੰ ਵਾਹਿਗੁਰੂਸਰੂਪ ਸੱਚੇ ਗੁਰੂ ਜੀ ਪ੍ਰਾਪਤ ਹੋਏ ਹਨ 
 ستِگُرُ پُرکھُ پائِیا ۄڈبھاگُ  
وڈبھاگ بلند قسمت سے ۔
خوش قسمتی سے سچے مرشد سے ملاپ ہوا۔

 ਦੂਜੈ ਭਾਇ ਭਵਹਿ ਬਿਖੁ ਮਾਇਆ ॥ ਭਾਗਹੀਨ ਨਹੀ ਸਤਿਗੁਰੁ ਪਾਇਆ ॥੩॥
 doojai bhaa-ay bhaveh bikh maa-i-aa. bhaagheen nahee satgur paa-i-aa. ||3||
Unfortunate are those who have not found the true Guru. Being in love with duality, they keep wandering for Maya.||3||
 
ਬਦਨਸੀਬ ਹਨ ਉਹ ਜਿਨ੍ਹਾਂ ਨੂੰ ਗੁਰੂ ਨਹੀਂ ਮਿਲਿਆ ਉਹ ਮਾਇਆ ਦੇ ਮੋਹ ਵਿਚ ਫਸ ਕੇ ਮਾਇਆ ਦੀ ਖ਼ਾਤਰ ਭਟਕਦੇ ਫਿਰਦੇ ਹਨ  
 دوُجےَ بھاءِ بھۄہِ بِکھُ مائِیا  بھاگہیِن نہیِ ستِگُرُ پائِیا  
بھائے ۔ پیار۔ دوجے بھائے ۔ خدا کے علاوہ دوسروں سے پیار ۔ بھوے ۔ بھٹکتا ہے ۔ دکھ مایئیا ۔ دنیاوی ہر یہی دؤلت ۔ بھاگ ہیں۔ بد قسمت
خدا کے علاوہ دوسری محبتوں سے انسان اس دنیاوی دؤلت جو ایک زہر کی مانند ہے ۔ بھٹکن میں پرارہتا ہے ۔ بد قسمت کا سچے مرشد سے ملاپ ہوتا ہے ۔

 ਅੰਮ੍ਰਿਤੁ ਹਰਿ ਰਸੁ ਹਰਿ ਆਪਿ ਪੀਆਇਆ ॥
amrit har ras har aap pee-aa-i-aa.
The one whom God Himself blesses with the ambrosial elixir of His Name,
 
ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੇ ਆਪ ਹੀ ਜਿਸ ਮਨੁੱਖ ਨੂੰ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੇਣ ਵਾਲਾ ਨਾਮਜਲ ਹਰਿਨਾਮਰਸ ਪਿਲਾ ਦਿੱਤਾ,
 انّم٘رِتُ ہرِ رسُ ہرِ آپ پیِیائِیا  
ہررس۔ الہٰی لطف ۔
روحانی زندگی کا پانی الہٰی لطف خدا نے خد پلایا ۔ 

 ਗੁਰਿ ਪੂਰੈ ਨਾਨਕ ਹਰਿ ਪਾਇਆ ॥੪॥੩॥੫੫॥
gur poorai naanak har paa-i-aa. ||4||3||55||
has realized God through the perfect Guru, O’ Nanak.||4||3||55||
 
ਹੇ ਨਾਨਕਉਸ ਨੇ ਪੂਰੇ ਗੁਰੂ ਦੀ ਰਾਹੀਂ ਉਸ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੂੰ ਲੱਭ ਲਿਆ ੫੫
 گُرِ پوُرےَ نانک ہرِ پائِیا 
گرپورے ۔ کامل مرشد
نانک اس نے کامل مرشد کے زریعے خدا پالیا۔

 ਆਸਾ ਮਹਲਾ ੪ ॥
aasaa mehlaa 4.
Raag Aasaa, Fourth Guru:
 آسا مہلا   
 ਮੇਰੈ ਮਨਿ ਤਨਿ ਪ੍ਰੇਮੁ ਨਾਮੁ ਆਧਾਰੁ ॥
mayrai man tan paraym naam aaDhaar.
Within my mind and body is the love for God, and His Name is my support.
ਮੇਰੇ ਮਨ ਅਤੇ ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਪਿਆਰ ਹੈਤੇ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਮੇਰਾ ਆਸਰਾ ਹੈ
 میرےَ منِ تنِ پ٘ریمُ نامُ آدھارُ  
آدھار ۔ آسرا۔
اے میرے دوستوں اور شریک حیات سچ اور حقیقت کی ریاض کیجئے نام اور سچ کے بغیر میرے لئے زندگی کا کوئی سہارا نہیں۔

 ਨਾਮੁ ਜਪੀ ਨਾਮੋ ਸੁਖ ਸਾਰੁ ॥੧॥
naam japee naamo sukh saar. ||1||
I meditate on Naam which is the essence of peace. ||1||
 
ਮੈਂ ਨਾਮ ਜਪਦਾ ਹਾਂਨਾਮ ਹੀ ਸੁਖਾਂ ਦਾ ਨਿਚੋੜ ਹੈ 
 نامُ جپیِ نامو سُکھ سارُ  
ناموسکھ سار۔ نام یعنی سچائی سے سکھ کی اصلیت کا پتہ چلتا ہے ۔
 نام سے ہی نام کی ریاض سے حقیقی سکھ کا پتہ چلتا ہے اور سکھ کی بنیاد ہے۔

 ਨਾਮੁ ਜਪਹੁ ਮੇਰੇ ਸਾਜਨ ਸੈਨਾ ॥
naam japahu mayray saajan sainaa.
O’ my friends and companions, meditate on Naam with loving devotion.
ਹੇ ਮੇਰੇ ਸਜਣੋਂ ਤੇ ਮਿੱਤਰੋਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਜਪਿਆ ਕਰੋ
 نامُ جپہُ میرے ساجن سیَنا  
ساجن سینا۔ دوست رشتہ دار ۔
اے میرے دوست احباب محبت کے ساتھ الہٰی نام پر غور کریں۔

 ਨਾਮ ਬਿਨਾ ਮੈ ਅਵਰੁ ਨ ਕੋਈ ਵਡੈ ਭਾਗਿ ਗੁਰਮੁਖਿ ਹਰਿ ਲੈਨਾ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥
naam binaa mai avar na koi-ee vadai bhaag gurmukh har lainaa. ||1|| rahaa-o.
Except God’s Name, I find no other support in life. It is only by good fortune that God is realized through the Guru ,s teachings. ||1||Pause||
 
ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਨਾਮ ਤੋਂ ਬਿਨਾ ਮੈਨੂੰ ਤਾਂ ਜ਼ਿੰਦਗੀ ਦਾ ਹੋਰ ਕੋਈ ਆਸਰਾ ਨਹੀਂ ਦਿੱਸਦਾ ਇਹ ਹਰਿਨਾਮ ਵੱਡੀ ਕਿਸਮਤਿ ਨਾਲ ਗੁਰੂ ਦੀ ਰਾਹੀਂ ਹੀ ਮਿਲ ਸਕਦਾ ਹੈ  ਰਹਾਉ 
 نام بِنا مےَ اۄرُ ن کوئیِ ۄڈےَ بھاگِ گُرمُکھِ ہرِ لیَنا 
گورمکھ ۔ مرشد کے وسیلےس ے
میرے دل و جان کو نام یا سچ کا ہی آسرا ہے ۔بلند قسمت سے مرشد کے ذریعے خدا سے ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔

 ਨਾਮ ਬਿਨਾ ਨਹੀ ਜੀਵਿਆ ਜਾਇ ॥
 naam binaa nahee jeevi-aa jaa-ay.
 Without meditating on God’s Name one cannot spiritually survive.
 
ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਜਪਣ ਤੋਂ ਬਿਨਾ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਨਹੀਂ ਮਿਲ ਸਕਦਾ
 نام بِنا نہیِ جیِۄِیا جاءِ  
جیویا۔ زندگی
نام یعنی سچ کے بغیر یہ زندگی گذارنا نا ممکن ہے

 ਵਡੈ ਭਾਗਿ ਗੁਰਮੁਖਿ ਹਰਿ ਪਾਇ ॥੨॥
vadai bhaag gurmukh har paa-ay. ||2||
It is by good fortune alone that one receives God’s Name. ||2||
 
ਇਹ ਹਰਿਨਾਮ ਵੱਡੀ ਕਿਸਮਤ ਨਾਲ ਗੁਰੂ ਦੀ ਰਾਹੀਂ ਹੀ ਮਿਲਦਾ ਹੈ  
 ۄڈےَ بھاگِ گُرمُکھِ ہرِ پاءِ
خوش قسمتی سے ہی خدا کا نام پاتا ہے۔

 ਨਾਮਹੀਨ ਕਾਲਖ ਮੁਖਿ ਮਾਇਆ ॥
naamheen kaalakh mukh maa-i-aa.
Those who do not meditate on Naam are disgraced due to the love for Maya.
ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਨਾਮ ਤੋਂ ਵਾਂਜੇ ਰਿਹਾਂ ਮਾਇਆ ਦੇ ਮੋਹ ਦੇ ਕਾਰਨ ਮੂੰਹ ਉਤੇ ਕਾਲਖ ਲੱਗਦੀ ਹੈ l
 نامہیِن کالکھ مُکھِ مائِیا  
نام ہین ۔ سچ اور سچائی کے بگیر ۔
جو لوگ نام پر غور نہیں کرتے ہیں وہ مایا سے محبت کی وجہ سے رسوا ہیں

 ਨਾਮ ਬਿਨਾ ਧ੍ਰਿਗੁ ਧ੍ਰਿਗੁ ਜੀਵਾਇਆ ॥੩॥
naam binaa Dharig Dharig jeevaa-i-aa. ||3||
Accursed is the life lived without meditating on Naam. ||3||
 
ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਸਿਮਰਨ ਤੋਂ ਬਿਨਾ ਜੀਊਣਾ ਫਿਟਕਾਰਜੋਗ ਹੈ 
 نام بِنا دھ٘رِگُ دھ٘رِگُ جیِۄائِیا 
دھرگ دھرگ ۔ پھٹکار۔ لعنت
نام یعنی سچ کے بغیر یہ زندگی گذارنا ایک لعنت ہے