Urdu-Page-286

ਤਾ ਕਉ ਰਾਖਤ ਦੇ ਕਰਿ ਹਾਥ ॥
taa ka-o raakhat day kar haath.
He himself preserves him.
تا کءُ راکھت دے کرِ ہاتھ
تاکوؤ۔ اسے ۔ راکھت ۔ بچاتا ہے
خدا اپنی امداد سے اسے بچاتا ہے ۔

 ਮਾਨਸ ਜਤਨ ਕਰਤ ਬਹੁ ਭਾਤਿ ॥
maanas jatan karat baho bhaat.
One makes all sorts of efforts,
مانس جتن کرت بہُ بھاتِ
۔ جتن ۔ کوشش۔ نرود۔ بہو ۔ بھات ۔ بہت سے طریقوں سے ۔
انسان طرح طرح کی کوشش کرتا ہے 

 ਤਿਸ ਕੇ ਕਰਤਬ ਬਿਰਥੇ ਜਾਤਿ ॥
tis kay kartab birthay jaat.
but all these efforts are in vain without the will of God.
تِس کے کرتب بِرتھے جاتِ
کرتب۔ کام ۔ برتھے ۔ بیفائدہ ۔
۔ مگر سارے کام اس کے جو کرتا ہے ۔ بیکار اور بیفائدہ ہوتے ہیں۔ 

 ਮਾਰੈ ਨ ਰਾਖੈ ਅਵਰੁ ਨ ਕੋਇ ॥ ਸਰਬ ਜੀਆ ਕਾ ਰਾਖਾ ਸੋਇ ॥
maarai na raakhai avar na ko-ay. sarab jee-aa kaa raakhaa so-ay.
God is the Protector of all beings; no one other than God Himself can save or kill.

مارےَ ن راکھےَ اورُ ن کۄءِ سرب جیِیا کا راکھا سۄءِ
اور ۔ دوسرا ۔ سرب جیا ۔ تمام جانداروں کا ۔ راکھا سوئے ۔ بچانے وہی ہے ۔
مارنے والا اور بچانے والا نہیں کو دوسرا تمام جانداروں کو بچانے والا ہے

 ਕਾਹੇ ਸੋਚ ਕਰਹਿ ਰੇ ਪ੍ਰਾਣੀ ॥
kaahay soch karahi ray paraanee.
So, why are you so anxious, O’ mortal?
کاہے سۄچ کرہِ رے پ٘راݨی 
سوچ۔ فکر مند۔ پرانی ۔ انسان ۔
۔ وہی کیوں فکر مند ہے انسان ۔ 

 ਜਪਿ ਨਾਨਕ ਪ੍ਰਭ ਅਲਖ ਵਿਡਾਣੀ ॥੫॥
jap naanak parabh alakh vidaanee. ||5||
Meditate O’ Nanak, on that incomprehensible and amazing God. ||5||
جپِ نانک پ٘ربھ الکھ وِڈاݨی
الکھ ۔ جو بیان نہ ہو سکے ۔ وڈانی ۔ حیران کن ۔
اے نانک۔ اس حیران کن بیان سے باہر بلند عظمت خدا کو یاد کر ۔

 ਬਾਰੰ ਬਾਰ ਬਾਰ ਪ੍ਰਭੁ ਜਪੀਐ ॥
baaraN baar baar parabh japee-ai.
Time and again, let us meditate on Him,
بارنّ بار بار پ٘ربھُ جپیِۓَ
بار نبار ۔ بار بار ۔ 
بار بار یاد کر خدا کو آب حیات ہے یہ ۔ 

 ਪੀ ਅੰਮ੍ਰਿਤੁ ਇਹੁ ਮਨੁ ਤਨੁ ਧ੍ਰਪੀਐ ॥
pee amrit ih man tan Dharpee-ai.
and by drinking the elixir of Naam, let us satiate our mind and the senses of the body (the faculties of hearing, sight, smell, touch etc.). 

پی انّم٘رِتُ اِہُ منُ تنُ دھ٘رپیِۓَ
انمرت۔ آب حیات۔ زندگی بخشنے والا پانی ۔ دھرییئے ۔ سر کئے ۔ من تن ۔ دل و جان۔ 
دل و جان آب حیات پینے سے سیر ہوجاتا ہے 

 ਨਾਮ ਰਤਨੁ ਜਿਨਿ ਗੁਰਮੁਖਿ ਪਾਇਆ ॥
naam ratan jin gurmukh paa-i-aa.
The follower of the Guru who has acquired the jewel of Naam,
نام رتنُ جِنِ گُرمُکھِ پائِیا
گورمکھ ۔ مرید مرشد 
۔ صبر پاتا ہے ۔ جس نے مرید مرشد سے نام کا ہیرا پائیا ہے 

 ਤਿਸੁ ਕਿਛੁ ਅਵਰੁ ਨਾਹੀ ਦ੍ਰਿਸਟਾਇਆ ॥
tis kichh avar naahee daristaa-i-aa.
sees everywhere none but God. 
تِسُ کِچھُ اورُ ناہی د٘رِسٹائِیا
۔ درسٹائیا۔ نظر۔ دیکھا۔ 
۔ اسے اس عالم تب دوسرا نظر کب آئیا ہے ۔ 

 ਨਾਮੁ ਧਨੁ ਨਾਮੋ ਰੂਪੁ ਰੰਗੁ ॥
naam Dhan naamo roop rang.
For him, God’s Name is the true wealth and the true beauty.
نامُ دھنُ نامۄ رۄُپُ رنّگُ
دھن۔ سرمایہ ۔ دولت۔ روپ ۔ رنگ ۔ شکل وصورت ۔ 
نام ہی اس کی شکل وصورت نام ہی ۔ اسکا سرمایہ ہے 

 ਨਾਮੋ ਸੁਖੁ ਹਰਿ ਨਾਮ ਕਾ ਸੰਗੁ ॥
naamo sukh har naam kaa sang.
God’s Name is his comfort and companion.
نامۄ سُکھُ ہرِ نام کا سنّگُ
سنگ۔ ساتھ ۔ 
۔ نام ہی اس کے لئے راحت نام الہٰی ساتھی 

 ਨਾਮ ਰਸਿ ਜੋ ਜਨ ਤ੍ਰਿਪਤਾਨੇ ॥
naam ras jo jan tariptaanay.
Those who are satiated with the essence of Naam,
نام رسِ جۄ جن ت٘رِپتانے 
تر پتانے ۔ تمنا پوری ہوئی ۔ ارس۔ لطف
۔ جنہوں نے نام کی لذت پائی ہے ۔

 ਮਨ ਤਨ ਨਾਮਹਿ ਨਾਮਿ ਸਮਾਨੇ ॥
man tan naameh naam samaanay.
Keep their minds and the faculties of their bodies drenched with Naam.
من تن نامہِ نامِ سمانے
۔ مزہ ۔ سمانے ۔ جذب ہوگئے ۔ 
ان کی تمنا ہوئی ہے پوری ۔ دل وجان نام میں مجذوب ہوئے ۔

 ਊਠਤ ਬੈਠਤ ਸੋਵਤ ਨਾਮ ॥ ਕਹੁ ਨਾਨਕ ਜਨ ਕੈ ਸਦ ਕਾਮ ॥੬॥
oothat baithat sovat naam. kaho naanak jan kai sad kaam. ||6||
O’ Nanak, say, “At all times, meditating on God’s Name becomes a continuous avocation of the devotees of God”. ||6|| 

اۄُٹھت بیَٹھت سۄوت نام کہُ نانک جن کےَ سد کام
سووت ۔ سوتے وقت۔
ا یسے ہی اُٹھتے اور بیٹھتے نام خدا کا لیتے ہیں۔ اے نانک۔ بتادے خادمان خدا کا یہی کام ہے ۔

 ਬੋਲਹੁ ਜਸੁ ਜਿਹਬਾ ਦਿਨੁ ਰਾਤਿ ॥
bolhu jas jihbaa din raat.
Day and night, use the God-given tongue to utter His praises. 
بۄلہُ جسُ جِہبا دِنُ راتِ
جیہا ۔ زبان۔ دن رات۔ روز و شب۔
روز و شب زبان سے اس کی تعریف کرؤ

 ਪ੍ਰਭਿ ਅਪਨੈ ਜਨ ਕੀਨੀ ਦਾਤਿ ॥
parabh apnai jan keenee daat.
This gift of praising Him is conferred by God Himself on His servants.
پ٘ربھِ اپنےَ جن کیِنی داتِ
دات ۔ بخشش۔ جس ۔ تعریف۔
خدا نے اپنے خادم کو یہ نعمت بخشی ہے ۔

 ਕਰਹਿ ਭਗਤਿ ਆਤਮ ਕੈ ਚਾਇ ॥
karahi bhagat aatam kai chaa-ay.
The devotees perform devotional worship with heart-felt love,
کرہِ بھگتِ آتم کےَ چاءِ
بھگت۔ عبادت ۔ آتم۔ روح۔ چائے ۔ خوشی۔
۔ جو شوق اور د و جان سے خدا سے عشق لگاتے ہیں

 ਪ੍ਰਭ ਅਪਨੇ ਸਿਉ ਰਹਹਿ ਸਮਾਇ ॥
parabh apnay si-o raheh samaa-ay.
and thus remain absorbed in God.
پ٘ربھ اپنے سِءُ رہہِ سماءِ
سمائے ۔ مجذوب ۔ مدغم۔ محو۔
۔ خدا میں وہ مجذوب ہوجاتے ہین

 ਜੋ ਹੋਆ ਹੋਵਤ ਸੋ ਜਾਨੈ ॥ ਪ੍ਰਭ ਅਪਨੇ ਕਾ ਹੁਕਮੁ ਪਛਾਨੈ ॥
jo ho-aa hovat so jaanai. parabh apnay kaa hukam pachhaanai.
A devotee comprehends and believes in God’s will in all that happened in the past or is happening presently. 

جۄ ہۄیا ہۄوت سۄ جانے پ٘ربھ اپنے کا حُکمُ پچھانےَ َ
جو ہویا۔ جو ہوا ہے ۔ ہووت ہوگا ۔
۔ ایسے خادم جو ہوا ہے اور ہونا ہے جو جانتے ہیں۔ فرمان الہٰی پہچانتے ہیں۔ 

 ਤਿਸ ਕੀ ਮਹਿਮਾ ਕਉਨ ਬਖਾਨਉ ॥
tis kee mahimaa ka-un bakhaana-o.
Which of the virtues of such a devotee may I describe?
تِس کی مہِما کئُن بکھانءُ
مہما ۔ عظمت ۔ تعریف ۔ بکھانیو۔ بیان کر سکتا ہے ۔
تعریف ان کی کون بیان کرے وہ تعریفوں سے بالا ہیں۔ 

 ਤਿਸ ਕਾ ਗੁਨੁ ਕਹਿ ਏਕ ਨ ਜਾਨਉ ॥
tis kaa gun kahi ayk na jaan-o.
I know not how to describe even a single one of his qualities. 
تِس کا گُنُ کہِ ایک ن جانءُ
ایسے خادم کی عظمت میں کیا بیان کروں ۔ اسکا ایک وصف بھی بیان کرنے سے قاصر ہوں۔ 

 ਆਠ ਪਹਰ ਪ੍ਰਭ ਬਸਹਿ ਹਜੂਰੇ ॥ ਕਹੁ ਨਾਨਕ ਸੇਈ ਜਨ ਪੂਰੇ ॥੭॥
aath pahar parabh baseh hajooray. kaho naanak say-ee jan pooray. ||7||
Those who abide in the presence of God twenty-four hours a day, say O’ Nanak, “Are the perfect devotees”. ||7||

آٹھ پہر پ٘ربھ بسہِ حضۄُرے کہُ نانک سیئی جن پۄُرے
حضورے ۔ حاضر ناظر ۔ پورے ۔ کامل ۔
جن کے دل میں روز وشب الہٰی حضوری ہے ۔ اے نانک وہ کامل ہیں اور پورے ہیں۔

 ਮਨ ਮੇਰੇ ਤਿਨ ਕੀ ਓਟ ਲੇਹਿ ॥
man mayray tin kee ot layhi.
O’ my mind, seek the protection of those who always dwell in God’s presence;
من میرے تِن کی اۄٹ لیہِ
تن ۔ انکی ۔ اوٹ۔ آسرا ۔
اے دل میرے ایسے کامل انسانوں کے سایہ میں راہ

 ਮਨੁ ਤਨੁ ਅਪਨਾ ਤਿਨ ਜਨ ਦੇਹਿ ॥
man tan apnaa tin jan deh.
and dedicate your mind and the faculties of body to those devotees.
منُ تنُ اپنا تِن جن دیہِ
اور دل و جان بھینٹ کردے 

 ਜਿਨਿ ਜਨਿ ਅਪਨਾ ਪ੍ਰਭੂ ਪਛਾਤਾ ॥ ਸੋ ਜਨੁ ਸਰਬ ਥੋਕ ਕਾ ਦਾਤਾ ॥
jin jan apnaa parabhoo pachhaataa. so jan sarab thok kaa daataa.
The devotee who has recognized God, becomes benefactor of all things. 

جِنِ جنِ اپنا پ٘ربھۄُ پچھاتا سۄ جنُ سرب تھۄک کا داتا
سرب۔ سارے ۔ تھوک ۔ سارے خزانے ۔ تمام نعمتیں ۔ داتا۔ دینے و الا۔ سخاوت کرنے والا سخی ۔
۔ جس نے خدا کی کرلی پہچان سمجھ لی اس کی شان فیاض ہے وہ اور سب نعمتیں دینے کے لائق ہے 

 ਤਿਸ ਕੀ ਸਰਨਿ ਸਰਬ ਸੁਖ ਪਾਵਹਿ ॥
tis kee saran sarab sukh paavahi.
In his sanctuary, all comforts are obtained.
تِس کی سرنِ سرب سُکھ پاوہِ
سرن ۔ سایہ ۔ پناہ ۔ سر ب سکھ ۔ ہرطر ح کا آرام
۔ وہ اس کے سایہ میں تمام آرام پاتا ہے انسان ۔ ۔

 ਤਿਸ ਕੈ ਦਰਸਿ ਸਭ ਪਾਪ ਮਿਟਾਵਹਿ ॥
tis kai daras sabh paap mitaaveh.
By having the sight of such a devotee, you will eradicate all sins.
تِس کےَ درسِ سبھ پاپ مِٹاوہِ
۔ درس۔ دیدار۔ پاپ۔ گناہ
دیدار سے اس انسان سے سارے گناہ مٹ جاتے ہیں

 ਅਵਰ ਸਿਆਨਪ ਸਗਲੀ ਛਾਡੁ ॥
avar si-aanap saglee chhaad.
Renounce all other clevernesses,
اور سِیانپ سگلی چھاڈُ
۔ سیانپ ۔ دانشمندی ۔ سگلی ۔ ساری ۔ چھاؤ۔ ترک کر
۔ اے انسان تو تمام دنیاوی دانشمندیاں چھوڑ 

 ਤਿਸੁ ਜਨ ਕੀ ਤੂ ਸੇਵਾ ਲਾਗੁ ॥
tis jan kee too sayvaa laag.
and enjoin yourself to the service of such a devotee. 
تِسُ جن کی تۄُ سیوا لاگُ
۔ سیوا۔ خدمت
خدمت کر اس انسان کی 

 ਆਵਨੁ ਜਾਨੁ ਨ ਹੋਵੀ ਤੇਰਾ ॥ ਨਾਨਕ ਤਿਸੁ ਜਨ ਕੇ ਪੂਜਹੁ ਸਦ ਪੈਰਾ ॥੮॥੧੭॥
aavan jaan na hovee tayraa. naanak tis jan kay poojahu sad pairaa. ||8||17||
O’ Nanak, with sincerity, always follow the advice of such a devotee of God and your cycle of birth and death will come to an end. ||8||17||
آونُ جانُ ن ہۄوی تیرا نانک تِسُ جن کے پۄُجہُ سد پیَرا
۔ آون جان ۔ تناسخ ۔ پوجو ۔ پرستش۔
تیرا تناسخ مٹ جائیگا۔ اے نانک۔ ایسے انسانوں کے پاؤں کرؤ پرستش

 ਸਲੋਕੁ ॥
salok.
Shalok:
سلۄکُ
 ਸਤਿ ਪੁਰਖੁ ਜਿਨਿ ਜਾਨਿਆ ਸਤਿਗੁਰੁ ਤਿਸ ਕਾ ਨਾਉ ॥
sat purakh jin jaani-aa satgur tis kaa naa-o.
One who has realized the True Omnipresent God, is called the True Guru.
ستِ پُرکھُ جِنِ جانِیا ستِگُرُ تِس کا ناءُ
ست۔ سچا۔ صدیوی ۔ پرکھ ۔ انسان ۔ جانیا۔ پہچان کی ۔ سمجھ لیا ۔ ستگر۔ سچا مرشد۔ تس۔ اس ۔ ناؤ۔ نام۔
جس نے سچے پاک خدا کو سمجھ لیا پہچان لیا ہے ۔(ستگر) سچا مرشد اسکا نام ہے ۔ 

 ਤਿਸ ਕੈ ਸੰਗਿ ਸਿਖੁ ਉਧਰੈ ਨਾਨਕ ਹਰਿ ਗੁਨ ਗਾਉ ॥੧॥
tis kai sang sikh uDhrai naanak har gun gaa-o. ||1||
In the company of the True Guru, the disciple is saved from vices. Therefore O’ Nanak, you should also sing God’s praises in the company of such a True Guru.
تِس کےَ سنّگِ سِکھُ اُدھرےَ نانک ہرِ گُن گاءُ
سنگ ۔ صحبت ۔ سیکھ ۔ مرید ۔ ودیار تھی ۔ دھرے ۔ بچتا ہے ۔ ہر گن۔ الہٰی توصف ۔
اسکی صحبت و قربت سے طالب علم ر وحانیت کی بدکاریوں سے بچ جاتا ہے اے نانک الہٰی صفت صلاح کر ۔

 ਅਸਟਪਦੀ ॥
asatpadee.
Ashtapadee:
اسٹپدی
 ਸਤਿਗੁਰੁ ਸਿਖ ਕੀ ਕਰੈ ਪ੍ਰਤਿਪਾਲ ॥
satgur sikh kee karai partipaal.
The True Guru cherishes His disciple.
ستِگُرُ سِکھ کی کرےَ پ٘رتِپال
پرتپا ل ۔ پرورش۔
سچا مرشد اپنے طالب علم کی پرورش کر تا ہے 

 ਸੇਵਕ ਕਉ ਗੁਰੁ ਸਦਾ ਦਇਆਲ ॥
sayvak ka-o gur sadaa da-i-aal.
The Guru is always merciful to His servant.
سیوک کءُ گُرُ سدا دئِیال
دیال۔ مہربان
اپنے خادم پر ہمیشہ مہربانی کرتا ہے ۔ 

 ਸਿਖ ਕੀ ਗੁਰੁ ਦੁਰਮਤਿ ਮਲੁ ਹਿਰੈ ॥
sikh kee gur durmat mal hirai.
The Guru washes away the filth of impious thoughts from the disciple’s mind,
سِکھ کی گُرُ دُرمتِ ملُ ہِرےَ
۔ درمت ۔ بد عقلی ۔ ہرے ۔ مٹاتا ہے
سچا مرشد اپنے طالب علم کی بد کاریوں کی نا پاکیزگی دور کرتا ہے ۔ 

 ਗੁਰ ਬਚਨੀ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਉਚਰੈ ॥
gur bachnee har naam uchrai.
since following the advice of the Guru, the disciple recites God’s Name.
گُر بچنی ہرِ نامُ اُچرےَ
۔ گربچنی ۔ کلام مرشدی ۔ اچرے ۔ بیا ن کرتا ہے
کیونکہ واعظ مرشد سے وہ خدا کو یاد کرتا ہے ۔ 

 ਸਤਿਗੁਰੁ ਸਿਖ ਕੇ ਬੰਧਨ ਕਾਟੈ ॥
satgur sikh kay banDhan kaatai.
The Guru liberates His devotee from the bonds of worldly desires. 
ستِگُرُ سِکھ کے بنّدھن کاٹےَ
۔ بندھن ۔ غلامی ۔
سچا مرشد اپنے شاگرد کی ذہی غلامی کی بندشیں دور کر دیتا ہے 

 ਗੁਰ ਕਾ ਸਿਖੁ ਬਿਕਾਰ ਤੇ ਹਾਟੈ ॥
gur kaa sikh bikaar tay haatai.
The Sikh (disciple) of the Guru abstains from wicked deeds.
گُر کا سِکھُ بِکار تے ہاٹےَ
وکار ۔ بدکار ۔
جس سے شاگرد بدکاری چھوڑ دیتا ہے ۔

 ਸਤਿਗੁਰੁ ਸਿਖ ਕਉ ਨਾਮ ਧਨੁ ਦੇਇ ॥
satgur sikh ka-o naam Dhan day-ay.
The True Guru gives His Sikh (disciple) the wealth of Naam.
ستِگُرُ سِکھ کءُ نام دھنُ دےءِ
نام دھن۔ الہٰی نام کا سرمایہ
سچا مرشد اپنے شاگرد کو الہٰی نام کی دولت سے سرفراز کرتا ہے ۔ 

 ਗੁਰ ਕਾ ਸਿਖੁ ਵਡਭਾਗੀ ਹੇ ॥
gur kaa sikh vadbhaagee hay.
The disciple of the Guru is very fortunate.
گُر کا سِکھُ وڈبھاگی ہے
۔ وڈبھاگی ۔ خوش قسمت ۔
جس سے سچے مرشد کا سکھ بلند قسمت ہوجاتا ہے ۔

 ਸਤਿਗੁਰੁ ਸਿਖ ਕਾ ਹਲਤੁ ਪਲਤੁ ਸਵਾਰੈ ॥
satgur sikh kaa halat palat savaarai.
The true Guru enhances a disciple’s life both here and hereafter.
ستِگُرُ سِکھ کا ہلتُ پلتُ سوارےَ
ہلت۔ یہاں۔ پلت۔ اگلا جہاں ۔ ہر دو عالم ۔ حال و مستقبل ۔
سچا مرشد اپنے شاگر د کا ہر دو جہاں کا مستقبل سنوار دیتا ہے ۔ نیکو کار بنا دیتا ہے 

 ਨਾਨਕ ਸਤਿਗੁਰੁ ਸਿਖ ਕਉ ਜੀਅ ਨਾਲਿ ਸਮਾਰੈ ॥੧॥
naanak satgur sikh ka-o jee-a naal samaarai. ||1||
O’ Nanak, the True Guru loves His disciple from the core of His heart. ||1|| 
نانک ستِگُرُ سِکھ کءُ جیء نالِ سمارےَ
جیئہ نال۔ دل وجان سے ۔
۔ اے نانک سچا مرشد اپنے شاگرد کو دل وجان سے اس کی سنبھال کرتا ہے ۔

 ਗੁਰ ਕੈ ਗ੍ਰਿਹਿ ਸੇਵਕੁ ਜੋ ਰਹੈ ॥
gur kai garihi sayvak jo rahai.
The devotee who lives by the Guru’s door (always seeks Guru’s advice), 
گُر کےَ گ٘رِہِ سیوکُ جۄ رہےَ
گریہہ ۔ گھر ۔ آگیا۔ فرمان۔ حکم۔
جو شاگرد برائے تحصیل علم مرشد کے گھر پر رہتا ہے 

 ਗੁਰ ਕੀ ਆਗਿਆ ਮਨ ਮਹਿ ਸਹੈ ॥
gur kee aagi-aa man meh sahai.
and obeys the Guru’s Commands with all his heart,
گُر کی آگِیا من مہِ سہےَ
من میہہ سہے ۔ د ل سے برداشت کرئے ۔ جناوے ۔ ظاہر نہ کرئے ۔
اسے چاہیے مرشد کا حکم دل وجان سے مانے 

 ਆਪਸ ਕਉ ਕਰਿ ਕਛੁ ਨ ਜਨਾਵੈ ॥
aapas ka-o kar kachh na janaavai.
never displays pride in any way,
آپس کءُ کرِ کچھُ ن جناۄےَ 
۔ اسے اپنے آپ کی برتی ظاہر نہیں کرنی چاہیے ۔ 

 ਹਰਿ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਰਿਦੈ ਸਦ ਧਿਆਵੈ ॥
har har naam ridai sad Dhi-aavai.
always meditates on God’s Name,
ہرِ ہرِ نامُ رِدےَ سد دھِیاوےَ
ردھے ۔ دل میں۔
اور خدا کو ہمیشہ یاد کرتا ہے ۔ 

 ਮਨੁ ਬੇਚੈ ਸਤਿਗੁਰ ਕੈ ਪਾਸਿ ॥
man baychai satgur kai paas.
surrenders his mind to the True Guru,
منُ بیچےَ ستِگُر کےَ پاسِ
اور سچے مرشد کے مطابق اپنے من کو بنائے

 ਤਿਸੁ ਸੇਵਕ ਕੇ ਕਾਰਜ ਰਾਸਿ ॥
tis sayvak kay kaaraj raas.
that humble servant’s affairs are resolved.
تِسُ سیوک کے کارج راسِ
راس۔ کامیاب۔ درست۔
۔ ایسے خادم شاگرد کے کام درست ہوجاتے ہیں۔ 

 ਸੇਵਾ ਕਰਤ ਹੋਇ ਨਿਹਕਾਮੀ ॥
sayvaa karat ho-ay nihkaamee.
One who performs selfless service without any thought of reward,
سیوا کرت ہۄءِ نِہکامی
۔ نہکامی ۔ بلا خواہش عوضانہ ۔
بلا کسی عوضانے کی خواہش کے خدمت کرئے 

 ਤਿਸ ਕਉ ਹੋਤ ਪਰਾਪਤਿ ਸੁਆਮੀ ॥
tis ka-o hot paraapat su-aamee.
shall acquire his Master God. 
تِس کءُ ہۄت پراپتِ سُیامی
سوآمی ۔ آقا۔ مالک ۔
ایسے خدمتگار کا ملاپ آقا سے ہوجاتا ہے ۔