Urdu-Page-265

ਹਰਿ ਕਾ ਨਾਮੁ ਜਨ ਕਉ ਭੋਗ ਜੋਗ 
har kaa naam jan ka-o bhog jog.
The enjoyment of Maya and yoga for His devotees lies in the God’s Name.
ਜੋਗ –ਸਾਧਨ ਤੇ ਦਾ ਮਾਇਆ ਦਾ ਭੋਗਭਗਤ ਜਨ ਵਾਸਤੇ ਪ੍ਰਭੂ ਦਾ ਨਾਮ (ਹੀਹੈ,
ہرِ کا نامُ جن کءُ بھۄگ جۄگ
بھوگ۔ دنیاوی دولت۔ کا مزہ ۔ جوگ۔ تیاگ۔ پرہیز گاری
اس کے عقیدت مندوں کے لئے مایا اور یوگا کا لطف خدا کے نام پر ہے۔

ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਜਪਤ ਕਛੁ ਨਾਹਿ ਬਿਓਗੁ 
har naam japat kachh naahi bi-og.
By meditating on God’s Name, devotee never feels any pain and separation.
 
ਪ੍ਰਭੂ ਦਾ ਨਾਮ ਜਪਦਿਆਂ (ਉਸ ਨੂੰਕੋਈ ਵਿਛੋੜਾਕੋਈ ਦੁੱਖ ਕਲੇਸ਼ ਨਹੀਂ ਹੁੰਦਾ
ہرِ نامُ جپت کچھُ ناہِ بِئۄگُ
۔ ویوگ۔ جدائی کی پریشانی ۔
۔ الہٰی نام ہی یاد کرنے سے جدائی کی پیشانی نہیں آتی

ਜਨੁ ਰਾਤਾ ਹਰਿ ਨਾਮ ਕੀ ਸੇਵਾ 
jan raataa har naam kee sayvaa.
His devotee always remains absorbed in His remembrance,
(ਪ੍ਰਭੂ ਦਾਭਗਤ (ਸਦਾਪ੍ਰਭੂ ਦੇ ਨਾਮ ਦੀ ਸੇਵਾ (ਸਿਮਰਨਵਿਚ ਮਸਤ ਰਹਿੰਦਾ ਹੈ;
جنُ راتا ہرِ نام کی سیوا
راتا۔ محو۔
خادم الہٰی ہمیشہ الہٰی نام کی خدمت میں محو رہتا ہے

ਨਾਨਕ ਪੂਜੈ ਹਰਿ ਹਰਿ ਦੇਵਾ 
naanak poojai har har dayvaa. ||6||
O’ Nanak, devotee always worships the Omnipresent God.||6||

 
ਹੇ ਨਾਨਕਭਗਤ ਸਦਾ ਪ੍ਰਭੂਦੇਵ ਨੂੰ ਪੂਜਦਾ ਹੈ 
نانک پۄُجےَ ہرِ ہرِ دیوا
ہر ہر دیو۔ خدا نے ۔
۔ اے نانک خادم خدا ہمیشہ خدا کی پرستش کرتاہے ۔ 

ਹਰਿ ਹਰਿ ਜਨ ਕੈ ਮਾਲੁ ਖਜੀਨਾ 
har har jan kai maal khajeenaa.
For the devotee, God’s Name is the treasure of wealth.
ਪ੍ਰਭੂ ਦਾ ਨਾਮ ਭਗਤ ਦੇ ਵਾਸਤੇ ਮਾਲ ਧਨ ਹੈ,
ہرِ ہرِ جن کےَ مالُ خزیِنا
جن۔ خادم خدا ۔ بھگت ۔ عاشق الہٰی۔ عابد۔ خزنینہ ۔ خزانہ
الہٰی خادموں کے لئے خدا ہی دولت اور خزانہ ہے

ਹਰਿ ਧਨੁ ਜਨ ਕਉ ਆਪਿ ਪ੍ਰਭਿ ਦੀਨਾ 
har Dhan jan ka-o aap parabh deenaa.
God Himself has blessed His devotee this treasure of Naam.
ਇਹ ਨਾਮਰੂਪੀ ਧਨ ਪ੍ਰਭੂ ਨੇ ਆਪ ਆਪਣੇ ਭਗਤ ਨੂੰ ਦਿੱਤਾ ਹੈ
ہرِ دھنُ جن کءُ آپِ پ٘ربھِ دیِنا
۔ دیتا۔ دیا ۔ دیتا ہے ۔
یہ دولت اپنے خادموں کو خود دی ہوئی ے

ਹਰਿ ਹਰਿ ਜਨ ਕੈ ਓਟ ਸਤਾਣੀ 
har har jan kai ot sataanee.
God’s name is the powerful support for His devotees.
ਭਗਤ ਵਾਸਤੇ ਪ੍ਰਭੂ ਦਾ ਨਾਮ (ਹੀਤਕੜਾ ਆਸਰਾ ਹੈ,
ہرِ ہرِ جن کےَ اۄٹ ستاݨی
اوٹ۔ آسرا۔ ستانی ۔ قوت۔ طاقت۔
الٰہی خادموں عابدوں کو خدا ہی کا سہارا اور وہی ان کی طاقت اور قوت ہے

ਹਰਿ ਪ੍ਰਤਾਪਿ ਜਨ ਅਵਰ  ਜਾਣੀ 
har partaap jan avar na jaanee.
By God’s magnificence, the devotees do not seek any other support.
ਭਗਤਾਂ ਨੇ ਪ੍ਰਭੂ ਦੇ ਪ੍ਰਤਾਪ ਨਾਲ ਕਿਸੇ ਹੋਰ ਆਸਰੇ ਨੂੰ ਨਹੀਂ ਤੱਕਿਆ
ہرِ پ٘رتاپِ جن اور ن جاݨی
پر تاپ ۔ برکت۔ سا کی طاقت سے ۔
خادمان خدا الہٰی برکت و عنایت کی وجہ سے کسی دوسرے کی پرواہ نہیں کرتے

ਓਤਿ ਪੋਤਿ ਜਨ ਹਰਿ ਰਸਿ ਰਾਤੇ 
ot pot jan har ras raatay.
Through and through, His devotees stay imbued with God’s Love.
ਭਗਤ ਜਨ ਪ੍ਰਭੂਨਾਮਰਸ ਵਿਚ ਪੂਰੇ ਤੌਰ ਤੇ ਭਿੱਜੇ ਰਹਿੰਦੇ ਹਨ, 
اۄتِ پۄتِ جن ہرِ رسِ راتے
اوت پوت ۔ تانے پیٹے کی مانند۔ یکسو ہوکر۔ مکمل ملاپ سے ۔ ہر رس الہٰی لطف اور مزے ۔ راتے ۔ محو۔
اور اس کے وسیلے سے ، اس کے بھگت خدا کی محبت میں محو رہتے ہیں

ਸੁੰਨ ਸਮਾਧਿ ਨਾਮ ਰਸ ਮਾਤੇ 
sunn samaaDh naam ras maatay.
Completely absorbed in God’s love, they enjoy total tranquility in meditation. ਨਾਮਰਸ ਦੇ ਮੱਤੇ ਹੋਏ (ਮਨ ਦਾ ਉਹਟਿਕਾਉ (ਮਾਣਦੇ ਹਨਜਿਥੇ ਕੋਈ ਫੁਰਨਾ ਨਹੀਂ ਹੁੰਦਾ
سُنّن سمادھِ نام رس ماتے
سن ۔ سمادھ ۔ وہ روحانی حالت جس میں مکمل سکوت طاری ہو ۔ یعنی سوئی گرنے کا بھی شور سنائی نہ دے ۔ ماتے ۔ مست ۔ محو۔
وہ خدا سے تا نے پیٹے کی مانند مکمل یکسو اورمنسلک ہوکر الہٰی لطف میں محو اور مست رہتے ہیں۔ اور مکمل سکوت کا مزہ لیتے ہیں

ਆਠ ਪਹਰ ਜਨੁ ਹਰਿ ਹਰਿ ਜਪੈ 
aath pahar jan har har japai.
At all times the devotee recites God’s Name.
(ਪ੍ਰਭੂ ਦਾਭਗਤ ਅੱਠੇ ਪਹਰ ਪ੍ਰਭੂ ਨੂੰ ਜਪਦਾ ਹੈ,
آٹھ پہر جنُ ہرِ ہرِ جپےَ
آٹھ پہر۔ رو ز و شب۔ دن رات ۔
اور روز و شب حمدوثنا کرتے ہیں

ਹਰਿ ਕਾ ਭਗਤੁ ਪ੍ਰਗਟ ਨਹੀ ਛਪੈ 
har kaa bhagat pargat nahee chhapai.
God’s devotee becomes known and respected; he does not remain hidden.
ਵਾਹਿਗੁਰੂ ਦਾ ਸਾਧੂ ਉਘਾ ਹੁੰਦਾ ਹੈ ਅਤੇ ਲੁਕਿਆ ਹੋਇਆ ਨਹੀਂ ਰਹਿੰਦਾ
ہرِ کا بھگتُ پ٘رگٹ نہی چھپےَ
پرگٹ۔ مشہور۔ ظاہر۔ چھپے ۔ چھپتا نہیں۔
اور وہ چھپائے بھی نہیں چھپتے

ਹਰਿ ਕੀ ਭਗਤਿ ਮੁਕਤਿ ਬਹੁ ਕਰੇ 
har kee bhagat mukat baho karay.
Devotional worship of God, liberates many from vices.
ਪ੍ਰਭੂ ਦੀ ਭਗਤੀ ਬੇਅੰਤ ਜੀਵਾਂ ਨੂੰ (ਵਿਕਾਰਾਂ ਤੋਂਖ਼ਲਾਸੀ ਦਿਵਾਉਂਦੀ ਹੈ;
ہرِ کی بھگتِ مُکتِ بہُ کرے
مکت۔ نجات۔ آزاد۔ یعنی ۔ ذہنی اور دنیاوی بندشوں اور غلامیوں سے ذاد ۔
خادمان خدا بیشمار انسانوں کو بدکاریوں اور بدیوں سے نجات دلاتے ہیں۔

ਨਾਨਕ ਜਨ ਸੰਗਿ ਕੇਤੇ ਤਰੇ 
naanak jan sang kaytay taray. ||7||
O’ Nanak, many others who stay in the company His devotees, swim across the world-ocean of vices. ||7||
ਹੇ ਨਾਨਕਭਗਤ ਦੀ ਸੰਗਤਿ ਵਿਚ ਕਈ ਹੋਰ (ਭੀਤਰ ਜਾਂਦੇ ਹਨ
نانک جن سنّگِ کیتے ترے
اے نانک ۔ ان کی صحبت و قربت سے فیضا ب ہوتے ہیں۔ 

ਪਾਰਜਾਤੁ ਇਹੁ ਹਰਿ ਕੋ ਨਾਮ 
paarjaat ih har ko naam.
The Name of God is like ‘Paarijat’ (mythical Elysian Tree of miraculous powers).
ਪ੍ਰਭੂ ਦਾ ਇਹ ਨਾਮ (ਹੀ) “ਪਾਰਜਾਤ” ਰੁੱਖ ਹੈ,
پارجاتُ اِہُ ہرِ کۄ نام
پار جات۔ باغ بہشت کا وہ درخت جوسار ی خواہشات پوری کرتا ۔
الہٰی نام ہی بہشتی درخت شجر ہے جو تمام خواہشات پوری کرتاہے 

ਕਾਮਧੇਨ ਹਰਿ ਹਰਿ ਗੁਣ ਗਾਮ 
kaamDhayn har har gun gaam.
Singing God’s praises is like the kaamdhen (mythical cow) that can grant all wishes.
ਪ੍ਰਭੂ ਦੇ ਗੁਣ ਗਾਉਣੇ (ਹੀ ਇੱਛਾਪੂਰਕ) “ਕਾਮਧੇਨ” ਹੈ
کام دھین ہرِ ہرِ گُݨ گام
کام دھن ۔ دیوتاؤں یا فرشتوں کی وہ گائے جو تمام خواہشات پوری کرتی ہے ۔ ہر گن کام الہٰی حمدوثناہ
الہٰی حمدوثنا ہی کام دھین بہشتی گائے ہے ۔ جو تمام خواہشات پوری کرتی ہے ۔ 

ਸਭ ਤੇ ਊਤਮ ਹਰਿ ਕੀ ਕਥਾ 
sabh tay ootam har kee kathaa.
Discourse on God’s virtues is of greater importance than all other talks.
ਪ੍ਰਭੂ ਦੀਆਂ (ਸਿਫ਼ਤਸਾਲਾਹ ਦੀਆਂਗੱਲਾਂ (ਹੋਰਸਭ (ਗੱਲਾਂਤੋਂ ਚੰਗੀਆਂ ਹਨ, 
سبھ تے اۄُتم ہرِ کی کتھا
اتم۔ بلند مھسو ۔ بلند عصمت۔ تل ۔ باربر ۔
الہٰی صفت صلاح سب سے بہتر کہانی ہے

ਨਾਮੁ ਸੁਨਤ ਦਰਦ ਦੁਖ ਲਥਾ 
naam sunat darad dukh lathaa.
Listening the Naam, pain and sorrow are removed.
ਪ੍ਰਭੂ ਦਾਨਾਮ ਸੁਣਿਆਂ ਸਾਰੇ ਦੁਖ ਦਰਦ ਲਹਿ ਜਾਂਦੇ ਹਨ
نامُ سُنت درد دُکھ لتھا
جس کے سنتے سے تمام عذاب مٹ جاتے ہین

ਨਾਮ ਕੀ ਮਹਿਮਾ ਸੰਤ ਰਿਦ ਵਸੈ 
naam kee mahimaa sant rid vasai.
The Glory of the Naam dwells in the hearts of His Saints.
(ਪ੍ਰਭੂ ਦੇਨਾਮ ਦੀ ਵਡਿਆਈ ਸੰਤਾਂ ਦੇ ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਵੱਸਦੀ ਹੈ,
نام کی مہِما سنّت رِد وسےَ
۔ نام کی عظمت عارفاں الہٰی کے دل میں بستی ہے

ਸੰਤ ਪ੍ਰਤਾਪਿ ਦੁਰਤੁ ਸਭੁ ਨਸੈ 
sant partaap durat sabh nasai.
By the blessings of His Saints, all sins are dispelled.
ਸੰਤਾਂ ਦੇ ਪ੍ਰਤਾਪ ਨਾਲ ਸਾਰਾ ਪਾਪ ਦੂਰ ਹੋ ਜਾਂਦਾ ਹੈ
سنّت پ٘رتاپِ دُرتُ سبھُ نسےَ
اور عارفوں کی برکت سے تمام گناہ رفو ہوجاتے ہین

ਸੰਤ ਕਾ ਸੰਗੁ ਵਡਭਾਗੀ ਪਾਈਐ 
sant kaa sang vadbhaagee paa-ee-ai.
The company of the Saints is obtained by great good fortune.
ਵੱਡੇ ਭਾਗਾਂ ਨਾਲ ਸੰਤਾਂ ਦੀ ਸੰਗਤਿ ਮਿਲਦੀ ਹੈ,
سنّت کا سنّگُ وڈبھاگی پائیِۓَ
عارفوں کی صحبت خوش قسمتی سے ملتی ہے 

ਸੰਤ ਕੀ ਸੇਵਾ ਨਾਮੁ ਧਿਆਈਐ 
sant kee sayvaa naam Dhi-aa-ee-ai.
By following the Saint’s (Guru’s) teaching one maditates on Naam
(ਅਤੇਸੰਤਾਂ ਦੀ ਸੇਵਾ (ਕੀਤਿਆਂ) (ਪ੍ਰਭੂ ਦਾਨਾਮ ਸਿਮਰੀਦਾ ਹੈ
سنّت کی سیوا نامُ دھِیائیِۓَ
اور خدمت عارفاں سے نام کی ریاض ہوتی ہے

ਨਾਮ ਤੁਲਿ ਕਛੁ ਅਵਰੁ  ਹੋਇ 
naam tul kachh avar na ho-ay.
There is nothing equal to the Naam.
ਪ੍ਰਭੂਨਾਮ ਦੇ ਬਰਾਬਰ ਹੋਰ ਕੋਈ (ਪਦਾਰਥਨਹੀਂ,
نام تُلِ کچھُ اورُ ن ہۄءِ
الہٰی نام کے برابر دوسری کوئی شے نہیں

ਨਾਨਕ ਗੁਰਮੁਖਿ ਨਾਮੁ ਪਾਵੈ ਜਨੁ ਕੋਇ 
naanak gurmukh naam paavai jan ko-ay. ||8||2||
O’ Nanak, rare are the one who receive Naam from the Guru. ||8||2||
ਹੇ ਨਾਨਕਗੁਰੂ ਦੇ ਸਨਮੁਖ ਹੋ ਕੇ ਕੋਈ ਵਿਰਲਾ ਮਨੁੱਖ ਨਾਮ (ਦੀ ਦਾਤਿਲੱਭਦਾ ਹੈ 
نانک گُرمُکھِ نامُ پاوےَ جنُ کۄءِ
اے نانک۔ مرشد کے وسیلے سے کوئی انسان ہی نام کی نعمت پاتا ہے ۔ 

ਸਲੋਕੁ 
salok.
Shalok:
سلۄکُ
ਬਹੁ ਸਾਸਤ੍ਰ ਬਹੁ ਸਿਮ੍ਰਿਤੀ ਪੇਖੇ ਸਰਬ ਢਢੋਲਿ 
baho saastar baho simritee paykhay sarab dhadhol.
I have seen and searched many Shastras and Simritees (the holy books on faith, rituals and codes of conduct).
ਬੜੇ ਸ਼ਾਸਤਰ ਅਤੇ ਘਣੀਆਂ ਹੀ ਸਿੰਮ੍ਰਤੀਆਂ ਮੈਂ ਵੇਖੀਆਂ ਹਨ ਅਤੇ ਉਨ੍ਹਾਂ ਸਾਰਿਆਂ ਦੀ ਖੋਜ ਭਾਲ ਕੀਤੀ ਹੈ (ਇਹ ਪੁਸਤਕ ਕਈ ਤਰ੍ਹਾਂ ਦੀ ਗਿਆਨਚਰਚਾ ਤੇ ਕਈ ਧਾਰਮਿਕ ਤੇ ਭਾਈਚਾਰਕ ਰਸਮਾਂ ਸਿਖਾਉਂਦੇ ਹਨ) 
بہُ ساست٘ر بہُ سِم٘رِتی پیکھے سرب ڈھڈھۄلِ
پیکھے ۔ دیکھے ۔ سرب۔ سارے ۔ ڈھڈول ۔ مطالعہ کرکے ۔
بہت سے ہندوں کے دھارمک گرنتھ اور شاشتروں اور سمرتیوں کا مطالعہ کیا ہے ۔

ਪੂਜਸਿ ਨਾਹੀ ਹਰਿ ਹਰੇ ਨਾਨਕ ਨਾਮ ਅਮੋਲ 
poojas naahee har haray naanak naam amol. ||1||
O’ Nanak, the teachings in these holy books do not reach anywhere near the merit of meditating upon the priceless Name of God. ||1||
ਹੇ ਨਾਨਕਉਹ ਵਾਹਿਗੁਰੂ ਸੁਆਮੀ ਦੇ ਅਮੋਲਕ ਨਾਮ ਦੇ ਬਰਾਬਰ ਨਹੀਂ ਪੁਜਦੇ
پۄُجسِ ناہی ہرِ ہرے نانک نام امۄل
بہس۔ برابر نہیں ۔ ہر یرے ۔ خدا کے برابر ۔ امول۔ بیش قیمت۔
اے نانک الہٰی نام یعنی خدا کے نام کے برابر کوئی نہیں اے نانک۔ نام کی قدرو قیمت لا مثال ہے ۔ 

ਅਸਟਪਦੀ 
asatpadee.
Ashtapadee:
اسٹپدی
ਜਾਪ ਤਾਪ ਗਿਆਨ ਸਭਿ ਧਿਆਨ 
jaap taap gi-aan sabh Dhi-aan.
If one performs ritual recitations, undergoes penances, acquires spiritual knowledge and concentrates in all sorts of meditation,
ਜੇ ਕੋਈ ਵੇਦਮੰਤ੍ਰਾਂ ਦੇ ਜਾਪ ਕਰੇਸਰੀਰ ਨੂੰ ਧੂਣੀਆਂ ਨਾਲ ਤਪਾਏਕਈ ਗਿਆਨ ਦੀਆਂ ਗੱਲਾਂ ਕਰੇ ਤੇ ਦੇਵਤਿਆਂ ਦੇ ਧਿਆਨ ਧਰੇ, 
جاپ تاپ گِیان سبھِ دھِیان
جاپ۔ زبان سے کسی واعط کا بار بار بولنا۔ تاپ۔ جسم کو ۔ کوفت دینا۔ تپ ۔ تسپیا ۔ گیان ۔علم حاصل کرنا۔ دھیان ۔ توجہ دینا۔ سگل ۔
ریاض۔ تپسیا۔ علم و ہنر اور توجہی ۔ چھ شاشتروں اور سمرتیوں کے پندو واعظ کا مطالعہ کرکے دیکھا ہے

ਖਟ ਸਾਸਤ੍ਰ ਸਿਮ੍ਰਿਤਿ ਵਖਿਆਨ 
khat saastar simrit vakhi-aan.
gives sermons on six shastras and Smritis ( books of spiritual knowledge),
ਛੇ ਸ਼ਾਸਤ੍ਰਾਂ ਤੇ ਸਿਮ੍ਰਿਤੀਆਂ ਦਾ ਉਪਦੇਸ਼ ਕਰੇ;
کھٹ ساست٘ر سِم٘رِتِ وکھِیان
صحیفوں کے فلسفے اور خطبات کے چھ مدرسے

ਜੋਗ ਅਭਿਆਸ ਕਰਮ ਧ੍ਰਮ ਕਿਰਿਆ 
jog abhi-aas karam Dharam kiri-aa.
practices Yoga and righteous conduct;
ਜੋਗ ਦੇ ਸਾਧਨ ਕਰੇਕਰਮ ਕਾਂਡੀ ਧਰਮ ਦੀ ਕ੍ਰਿਆ ਕਰੇ,
جۄگ ابھِیاس کرم دھ٘رم کِرِیا
یوگا اور نیک سلوک کا عمل

ਸਗਲ ਤਿਆਗਿ ਬਨ ਮਧੇ ਫਿਰਿਆ 
sagal ti-aag ban maDhay firi-aa.
renunciates everything and wanders around in the wilderness;
(ਜਾਂਸਾਰੇ (ਕੰਮਛੱਡ ਕੇ ਜੰਗਲਾਂ ਵਿਚ ਭਉਂਦਾ ਫਿਰੇ;
سگل تِیاگِ بن مدھے پھِرِیا
تیاگ ۔ پرہیز گاری ۔ بن۔ جنگل ۔ مدھے ۔ میں ۔
ہر چیز کا ترک اور بیابان میں گھومنا۔

ਅਨਿਕ ਪ੍ਰਕਾਰ ਕੀਏ ਬਹੁ ਜਤਨਾ 
anik parkaar kee-ay baho jatnaa.
performs all sorts of efforts to please God,
ਅਨੇਕਾਂ ਕਿਸਮਾਂ ਦੇ ਬੜੇ ਜਤਨ ਕਰੇ,
انِک پ٘رکار کیِۓ بہُ جتنا
انک ۔ بیشما۔ر پر کار۔ طریقوں سے ۔ جتنا ۔ کوشش ۔
ہر طرح کے کاموں کی کارکردگی۔

ਪੁੰਨ ਦਾਨ ਹੋਮੇ ਬਹੁ ਰਤਨਾ 
punn daan homay baho ratnaa.
donates to charities and performs havan (sacred fire) by burning lot of oil;
ਪੁੰਨਦਾਨ ਕਰੇ ਤੇ ਬਹੁਤ ਸਾਰਾ ਘਿਉ ਹਵਨ ਕਰੇ,
پُنّن دان ہۄمے بہُ رتنا
ہونمے ۔ ہون ۔ رسنا۔ قیمتی نعمتیں۔
خیراتی اداروں کو عطیہ اور جواہرات کو آگ لگانے کے لئے۔

ਸਰੀਰੁ ਕਟਾਇ ਹੋਮੈ ਕਰਿ ਰਾਤੀ 
sareer kataa-ay homai kar raatee.
gets the body cut into tiny pieces and burn them in the ceremonial fire,
ਆਪਣੇ ਸਰੀਰ ਨੂੰ ਰਤੀ ਰਤੀ ਕਰ ਕੇ ਕਟਾਵੇ ਤੇ ਅੱਗ ਵਿਚ ਸਾੜ ਦੇਵੇ, 
سریِرُ کٹاءِ ہۄمےَ کرِ راتی
راتی ۔ ذرہ ۔ ذرہ
جسم کو الگ کرکے کاٹنا اور ٹکڑوں کو رسمی طور پر آگ کی قربانیوں میں بنانا

ਵਰਤ ਨੇਮ ਕਰੈ ਬਹੁ ਭਾਤੀ 
varat naym karai baho bhaatee.
observes fasts and all kinds of rituals with strict routine,
ਕਈ ਕਿਸਮਾਂ ਦੇ ਵਰਤਾਂ ਦੇ ਬੰਧੇਜ ਕਰੇ;
ورت نیم کرےَ بہُ بھاتی
۔ درت۔ ؎پرہیز ۔ نیم۔ روزانہ کا ۔ بہو بھالی ۔ بہت سے طریقوں سے ۔
روزہ رکھنا اور ہر قسم کا نذر ماننا

ਨਹੀ ਤੁਲਿ ਰਾਮ ਨਾਮ ਬੀਚਾਰ  
nahee tul raam naam beechaar. 
all these are still not equal in merit to contemplation on God’s Name,
 ਇਹ ਸਾਰੇ ਹੀ ਪ੍ਰਭੂ ਦੇ ਨਾਮ ਦੀ ਵਿਚਾਰ ਦੇ ਬਰਾਬਰ ਨਹੀਂ ਹਨ
نہی تُلِ رام نام بیِچار
تل ۔ برابر۔
ان میں سے کوئی بھی رب کے نام پر غور کرنے کے برابر نہیں ہے

ਨਾਨਕ ਗੁਰਮੁਖਿ ਨਾਮੁ ਜਪੀਐ ਇਕ ਬਾਰ 
naanak gurmukh naam japee-ai ik baar. ||1||
even if, O’ Nanak, the Name of God, received through the Guru, is recited once with love and devotion.||1||
(ਭਾਵੇਂਹੇ ਨਾਨਕਇਹ ਨਾਮ ਇਕ ਵਾਰੀ (ਭੀਗੁਰੂ ਦੇ ਸਨਮੁਖ ਹੋ ਕੇ ਜਪਿਆ ਜਾਏ l
نانک گُرمُکھِ نامُ جپیِۓَ اِک بار
اے نانک۔ مرشد کے وسیلے سے الہٰی نام کی اگر ایک دفعہ بھی ریاض ہوجائے ۔

ਨਉ ਖੰਡ ਪ੍ਰਿਥਮੀ ਫਿਰੈ ਚਿਰੁ ਜੀਵੈ 
na-o khand parithmee firai chir jeevai.
If one travels the entire world and lives a long life,
(ਜੇ ਕੋਈ ਮਨੁੱਖਸਾਰੀ ਧਰਤੀ ਤੇ ਫਿਰੇਲੰਮੀ ਉਮਰ ਤਕ ਜੀਊਂਦਾ ਰਹੇ,
نءُ کھنّڈ پ٘رِتھمی پھِرےَ چِرُ جیِوےَ
نوکھنڈ پرتھمی ۔ زمین کے نو براعطم ۔ چر جیوے ۔لمبی عمر۔
اگر کوئی انسان دنیا کے نو براعظموں میں گھوم لے لمبی عمر کیوں نہ گزارے 

ਮਹਾ ਉਦਾਸੁ ਤਪੀਸਰੁ ਥੀਵੈ 
mahaa udaas tapeesar theevai.
totally detached from the world as a great ascetic,
(ਜਗਤ ਵਲੋਂਬਹੁਤ ਉਪਰਾਮ ਹੋ ਕੇ ਵੱਡਾ ਤਪੀ ਬਣ ਜਾਏ; 
مہا اُداسُ تپیِسرُ تھیِوےَ
مہاں۔ اداس۔ بھاری پریشانی ۔ تپیسر ۔ تپسیا ۔ ریاضت ۔ بندگی ۔ تھیوے ۔ ہوجائے ۔
۔ دنیا کے جھنجتوں سے پریشانی ہوکر اسے چھوڑ کر عابد اور تپسیوی ہوجائے ے 

ਅਗਨਿ ਮਾਹਿ ਹੋਮਤ ਪਰਾਨ 
agan maahi homat paraan.
sacrifices his life in Sacred Fire,
ਅੱਗ ਵਿਚ (ਆਪਣੀਜਿੰਦ ਹਵਨ ਕਰ ਦੇਵੇ; 
اگنِ ماہِ ہۄمت پران
اور آ گ میں زندگی جلا ڈالے

ਕਨਿਕ ਅਸ੍ਵ ਹੈਵਰ ਭੂਮਿ ਦਾਨ 
kanik asav haivar bhoom daan.
gives away gold, horses, elephants and land in charity;
ਸੋਨਾਘੋੜੇਵਧੀਆ ਘੋੜੇ ਤੇ ਜ਼ਿਮੀਂ ਦਾਨ ਕਰੇ;
کنِک اس٘و ہیَور بھۄُمِ دان
کنک۔ سونا۔ سب ۔ گھوڑا۔ پیور۔ ہاتھی ۔ بھوم۔ زمین۔
۔ سونا ۔ چاندی اور اعلے گھوڑے ان کودے

ਨਿਉਲੀ ਕਰਮ ਕਰੈ ਬਹੁ ਆਸਨ 
ni-ulee karam karai baho aasan.
practices techniques of inner cleansing and all sorts of Yogic postures;
ਨਿਉਲੀ ਕਰਮ ਤੇ ਹੋਰ ਬਹੁਤ ਸਾਰੇ (ਯੋਗਆਸਨ ਕਰੇ,
نِئُلی کرم کرےَ بہُ آسن
بنوی کرم۔ یوگیوں کا ایک طریقہ جس سے انتڑیون کی صفائی کرتے ہیں۔
۔ جوگیوں کےنیولی اور آسنوں سے اپنے جسم کو پاک بنائے

ਜੈਨ ਮਾਰਗ ਸੰਜਮ ਅਤਿ ਸਾਧਨ 
jain maarag sanjam at saaDhan.
adopts the self-mortifying ways of the Jains and great spiritual disciplines;
ਜੈਨੀਆਂ ਦੇ ਰਸਤੇ (ਚੱਲ ਕੇਬੜੇ ਕਠਿਨ ਸਾਧਨ ਤੇ ਸੰਜਮ ਕਰੇ;
جیَن مارگ سنّجم اتِ سادھن
جین مارگ ۔ جنہوں کے راستے ۔ طریقے ۔ ات سادھن۔ بہت سے طریقے ۔
جین مذہب کے راستے کیوں نہ آپنائے اور بھاری پرہیز گاری اور ضبط اپناے

ਨਿਮਖ ਨਿਮਖ ਕਰਿ ਸਰੀਰੁ ਕਟਾਵੈ 
nimakh nimakh kar sareer kataavai.
gets his body cut piece by piece,
ਸਰੀਰ ਨੂੰ ਰਤਾ ਰਤਾ ਕਰ ਕੇ ਕਟਾ ਦੇਵੇ,
نِمکھ نِمکھ کرِ سریِرُ کٹاوےَ
نمکھ نمکھ ۔ ذرہ ذرہ ۔
اور اپنے جسم کو ریزہ ریزہ کرکے کٹالے

ਤਉ ਭੀ ਹਉਮੈ ਮੈਲੁ  ਜਾਵੈ 
ta-o bhee ha-umai mail na jaavai.
even then, the filth of ego shall not depart.
ਤਾਂ ਭੀ (ਮਨ ਦੀਹਉਮੈ ਦੀ ਮੈਲ ਦੂਰ ਨਹੀਂ ਹੁੰਦੀ
تءُ بھی ہئُمےَ میَلُ ن جاوےَ
ہونمے میل۔ خودی کی ناپاکیزگی ۔
۔ مگر تب بھی خودی کو پلیدی اور ناپاکی ختم نہ ہوگی 

ਹਰਿ ਕੇ ਨਾਮ ਸਮਸਰਿ ਕਛੁ ਨਾਹਿ 
har kay naam samsar kachh naahi.
There is nothing that can equal the Name of God.
(ਅਜੇਹਾਕੋਈ (ਉੱਦਮਪ੍ਰਭੂ ਦੇ ਨਾਮ ਦੇ ਬਰਾਬਰ ਨਹੀਂ ਹੈ;
ہرِ کے نام سمسرِ کچھُ ناہِ
سمسر۔ برابر ۔
غرض یہ کہ خدا کے نام کے برابر کوئی چیز نہیں ۔

ਨਾਨਕ ਗੁਰਮੁਖਿ ਨਾਮੁ ਜਪਤ ਗਤਿ ਪਾਹਿ 
naanak gurmukh naam japat gat paahi. ||2||
O’ Nanak, Guru’s followers obtain a supreme spiritual state by meditating on God’s Name with love and devotion ||2||
ਹੇ ਨਾਨਕਜੋ ਮਨੁੱਖ ਗੁਰੂ ਦੇ ਸਨਮੁਖ ਹੋ ਕੇ ਨਾਮ ਜਪਦੇ ਹਨ ਉਹ ਉੱਚੀ ਆਤਮਕ ਅਵਸਥਾ ਹਾਸਲ ਕਰਦੇ ਹਨ
نانک گُرمُکھِ نامُ جپت گتِ پاہِ
گورمکھ ۔ مرشد کے زریعے ۔ نام تپت۔ نام کی ریاض سے ۔ گت۔ بلند روحانی حالت۔
اے نانک نام کی ریاض سے ہی بلند روحانی رتبہ اور حالت حاصل ہوتی ہے ۔ 

ਮਨ ਕਾਮਨਾ ਤੀਰਥ ਦੇਹ ਛੁਟੈ 
man kaamnaa tirath dayh chhutai.
Some people may desire to die at a sacred place;
(ਕਈ ਪ੍ਰਾਣੀਆਂ ਦੇਮਨ ਦੀ ਇੱਛਾ (ਹੁੰਦੀ ਹੈ ਕਿਤੀਰਥਾਂ ਤੇ (ਜਾ ਕੇਸਰੀਰਕ ਚੋਲਾ ਛੱਡਿਆ ਜਾਏ,
من کامنا تیِرتھ دیہ چھُٹےَ
من کامنا۔ دلی خواہش۔ تیرتھ دیہر چھٹے ۔ زیارت گاہ پر ۔ موت ہو
دل کی خواہش سے کہ میری زیارت گاہ پرموت واقع ہوجائے

ਗਰਬੁ ਗੁਮਾਨੁ  ਮਨ ਤੇ ਹੁਟੈ 
garab gumaan na man tay hutai.
but even then, egotistical pride does not diminish from the mind.
(ਪਰ ਇਸ ਤਰ੍ਹਾਂ ਭੀਹਉਮੈ ਅਹੰਕਾਰ ਮਨ ਵਿਚੋਂ ਘਟਦਾ ਨਹੀਂ
گربُ گُمانُ ن من تے ہُٹےَ
۔ گربھ۔ تکبر۔ گھمنڈ۔ ہٹے ۔ کم نہیں ہوتا۔
مگر غرور اور تکبر دل سے نہیں جاتا

ਸੋਚ ਕਰੈ ਦਿਨਸੁ ਅਰੁ ਰਾਤਿ 
soch karai dinas ar raat.
One may practice cleansing baths at holy places day and night,
(ਮਨੁੱਖਦਿਨ ਤੇ ਰਾਤ (ਭਾਵਸਦਾ) (ਤੀਰਥਾਂ ਤੇਇਸ਼ਨਾਨ ਕਰੇ, 
سۄچ کرےَ دِنسُ ارُ راتِ
سوچ۔ جسمانی پاکیزگی ۔ سوچ۔ خیال آرائی ۔
۔ روز و شب پاکیزگی اور صفائی کرتا ہے ۔ 

ਮਨ ਕੀ ਮੈਲੁ  ਤਨ ਤੇ ਜਾਤਿ 
man kee mail na tan tay jaat.
but the filth of mind does not leave the body.
(ਫੇਰ ਭੀਮਨ ਦੀ ਮੈਲ ਸਰੀਰ ਧੋਤਿਆਂ ਨਹੀਂ ਜਾਂਦੀ
من کی میَلُ ن تن تے جاتِ
۔ جات۔ مٹتی نہیں ۔
مگر دل کی ناپاکیزگی جسم سے جاتی نہیں

ਇਸੁ ਦੇਹੀ ਕਉ ਬਹੁ ਸਾਧਨਾ ਕਰੈ 
is dayhee ka-o baho saaDhnaa karai.
One may subject the body to all sorts of disciplines,
ਇਸ ਸਰੀਰ ਨੂੰ (ਸਾਧਨ ਦੀ ਖ਼ਾਤਰ ਮਨੁੱਖਕਈ ਜਤਨ ਭੀ ਕਰੇ,
اِسُ دیہی کءُ بہُ سادھنا کرےَ
سادھنا۔ کوشش
۔ اس جسم کی پاکیزگی اور صفائی کے لئے انسان بہت کوشش کرتا ہے

ਮਨ ਤੇ ਕਬਹੂ  ਬਿਖਿਆ ਟਰੈ 
man tay kabhoo na bikhi-aa tarai.
the evil passions do not depart from the mind.
من تے کبہۄُ ن بِکھِیا ٹرےَ
۔ وکھیا ۔ زیر۔
۔ مگر تمام بھی دنیاوی دولت اور گناہگاریوں کی زہر دل سے نہیں جاتی

ਜਲਿ ਧੋਵੈ ਬਹੁ ਦੇਹ ਅਨੀਤਿ 
jal Dhovai baho dayh aneet.
One may wash this transitory body with loads of water,
ਇਸ ਨਾਸਵੰਤ ਸਰੀਰ ਨੂੰ ਕਈ ਵਾਰ ਪਾਣੀ ਨਾਲ ਭੀ ਧੋਵੇ,
جلِ دھۄوےَ بہُ دیہ انیِتِ
انیت۔ ہر رو ز نہ رہنے والی ۔ قابل فناہ ۔
۔ اس قابل فناہ مٹ جانے والے جسم کو کتنا ہی پانی سے صاف کیوں نہ کیا جائے

ਸੁਧ ਕਹਾ ਹੋਇ ਕਾਚੀ ਭੀਤਿ 
suDh kahaa ho-ay kaachee bheet.
but how can a wall of mud be washed clean?
ਤਾਂ ਭੀ ਇਹ ਕੱਚੀ ਕੰਧ ਕਿਸ ਤਰ੍ਹਾਂ ਸਾਫ ਸੁਥਰੀ ਹੋ ਸਕਦੀ ਹੈ? 
سُدھ کہا ہۄءِ کاچی بھیِتِ
کاچی بھیت ۔ خادم دیوار ۔
مگر کچی یا خام دیوار کی مانند جسم کبھی پاک نہ ہوگا۔

 ਮਨ ਹਰਿ ਕੇ ਨਾਮ ਕੀ ਮਹਿਮਾ ਊਚ 
man har kay naam kee mahimaa ooch.
O, my mind, greatest is the glory of God’s Name.
ਹੇ ਮਨਪ੍ਰਭੂ ਦੇ ਨਾਮ ਦੀ ਵਡਿਆਈ ਬਹੁਤ ਵੱਡੀ ਹੈ
من ہرِ کے نام کی مہِما اۄُچ
مہما۔ عظمت ۔ سہما اوچ۔ بلند عظمت ۔
اے دل الہٰی نام سچ حق و حقیقت بلند عطمت ہے

ਨਾਨਕ ਨਾਮਿ ਉਧਰੇ ਪਤਿਤ ਬਹੁ ਮੂਚ 
naanak naam uDhray patit baho mooch. ||3||
O’ Nanak, so many sinners get saved from vices by loving contemplation of Naam.||3||
ਹੇ ਨਾਨਕਨਾਮ ਦੀ ਬਰਕਤਿ ਨਾਲ ਅਣਗਿਣਤ ਮੰਦਕਰਮੀ ਜੀਵ (ਵਿਕਾਰਾਂ ਤੋਂਬਚ ਜਾਂਦੇ ਹਨ 
نانک نامِ اُدھرے پتِت بہُ مۄُچ
پتت۔ اکلاق انسانی سے گرے ہوئے ۔ انسان ۔ موچ۔ نہایت۔ ادھرے ۔ بچے ۔ بہو ۔ بہت ۔ زیادہ ۔ موچ۔ بدکردار۔ بد اخلاق
۔ اے نانک۔ بہت سے ناپاک۔ گناہگار ۔ اور بدکرداروں اور بداخلاقیوں کا نام سے بچاؤ ہوا ہے ۔

ਬਹੁਤੁ ਸਿਆਣਪ ਜਮ ਕਾ ਭਉ ਬਿਆਪੈ 
bahut si-aanap jam kaa bha-o bi-aapai.
By becoming extra clever, one is afflicted with fear of death,
(ਜੀਵ ਦੀਬਹੁਤੀ ਚਤੁਰਾਈ (ਦੇ ਕਾਰਣਜਮਾਂ ਦਾ ਡਰ (ਜੀਵ ਨੂੰ ਦਬਾਂਦਾ ਹੈ,
بہُتُ سِیاݨپ جم کا بھءُ بِیاپےَ
اضافی ہوشیار بننے سے ، شخص موت کے خوف سے دوچار ہے