Guru Granth Sahib Translation Project

Guru Granth Sahib Urdu Page 199

Page 199

ਸੰਤਸੰਗਿ ਤਹ ਗੋਸਟਿ ਹੋਇ ॥ وہاں ست سنگ میں واہے گرو کی کہانی پر گفتگو ہوتی ہے۔
ਕੋਟਿ ਜਨਮ ਕੇ ਕਿਲਵਿਖ ਖੋਇ ॥੨॥ اور کروڑوں جنموں کے گناہ مٹ جاتے ہیں۔ 2۔
ਸਿਮਰਹਿ ਸਾਧ ਕਰਹਿ ਆਨੰਦੁ ॥ سنت رب کو یاد کرکے بڑی خوشی حاصل کرتا ہے۔
ਮਨਿ ਤਨਿ ਰਵਿਆ ਪਰਮਾਨੰਦੁ ॥੩॥ اس کا دل اور جسم خالص خوشی میں مگن رہتا ہے۔ 3۔
ਜਿਸਹਿ ਪਰਾਪਤਿ ਹਰਿ ਚਰਣ ਨਿਧਾਨ ॥ جس نے رب کے قدموں کے ذخائر کو حاصل کرلیا ہے۔
ਨਾਨਕ ਦਾਸ ਤਿਸਹਿ ਕੁਰਬਾਨ ॥੪॥੯੫॥੧੬੪॥ غلام نانک اس پر قربان جاتا ہے۔ 4۔ 95۔ 164۔
ਗਉੜੀ ਮਹਲਾ ੫ ॥ گؤڑی محلہ 5۔
ਸੋ ਕਿਛੁ ਕਰਿ ਜਿਤੁ ਮੈਲੁ ਨ ਲਾਗੈ ॥ اے انسان! ایسا عمل کر، جس سے تیرے دل کو مال و دولت کی میل نہ لگے۔
ਹਰਿ ਕੀਰਤਨ ਮਹਿ ਏਹੁ ਮਨੁ ਜਾਗੈ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥ اور تمہارا یہ دل رب کی تسبیح و تحمید میں جاگتا رہے۔ 1۔وقفہ۔
ਏਕੋ ਸਿਮਰਿ ਨ ਦੂਜਾ ਭਾਉ ॥ اے انسان! ایک واہے گرو کا نام یاد کر اور کبر پر توجہ مت دے۔
ਸੰਤਸੰਗਿ ਜਪਿ ਕੇਵਲ ਨਾਉ ॥੧॥ عظیم انسانوں کی صحبت میں صرف نام کا ورد کر۔ 1۔
ਕਰਮ ਧਰਮ ਨੇਮ ਬ੍ਰਤ ਪੂਜਾ ॥ ਪਾਰਬ੍ਰਹਮ ਬਿਨੁ ਜਾਨੁ ਨ ਦੂਜਾ ॥੨॥ اے لوگو! عمل، مذہب، ورت اور پرستش و عبادت وغیرہسب رب کے بغیر کسی دوسرے کی پہچان نہ کرنے میں آجاتے ہیں۔2۔
ਤਾ ਕੀ ਪੂਰਨ ਹੋਈ ਘਾਲ ॥ ਜਾ ਕੀ ਪ੍ਰੀਤਿ ਅਪੁਨੇ ਪ੍ਰਭ ਨਾਲਿ ॥੩॥ اس شخص کا مراقبہ کامیاب ہوجاتا ہےجو اپنے رب سے محبت کرتا ہے۔ 3۔،
ਸੋ ਬੈਸਨੋ ਹੈ ਅਪਰ ਅਪਾਰੁ ॥ ਕਹੁ ਨਾਨਕ ਜਿਨਿ ਤਜੇ ਬਿਕਾਰ ॥੪॥੯੬॥੧੬੫॥ اے نانک! عمل، مذہب، ورت، پرستش والا وشنو نہیں؛ بلکہ وہی وشنو سب سے بہتر ہےجس نے تمام گناہ (برائی) کو ترک کردیا ہے۔ 4۔ 96۔ 165۔
ਗਉੜੀ ਮਹਲਾ ੫ ॥ گؤڑی محلہ 5۔
ਜੀਵਤ ਛਾਡਿ ਜਾਹਿ ਦੇਵਾਨੇ ॥ اے پاگل انسان! تیری زندگی میں مادی چیزیں اور رشتہ دار تجھے چھوڑ جاتے ہیں۔
ਮੁਇਆ ਉਨ ਤੇ ਕੋ ਵਰਸਾਂਨੇ ॥੧॥ کیا بعد از مرگ کوئی ان سے فائدہ حاصل کرسکتا ہے؟ 1۔
ਸਿਮਰਿ ਗੋਵਿੰਦੁ ਮਨਿ ਤਨਿ ਧੁਰਿ ਲਿਖਿਆ ॥ جس کے لیے خالق نے ایسا عمل لکھا ہوا ہے، وہ گووند کو اپنے دل اور جسم سے یاد کرتا ہے۔
ਕਾਹੂ ਕਾਜ ਨ ਆਵਤ ਬਿਖਿਆ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥ مایا (جس کے لیے انسان بھاگ دوڑ کرتا ہے) کسی کام نہیں آتی۔ 1۔ وقفہ۔
ਬਿਖੈ ਠਗਉਰੀ ਜਿਨਿ ਜਿਨਿ ਖਾਈ ॥ جس کسی نے خیانت نما زہر پیا ہے،
ਤਾ ਕੀ ਤ੍ਰਿਸਨਾ ਕਬਹੂੰ ਨ ਜਾਈ ॥੨॥ اس کی پیاس کبھی نہیں بجھ سکتی۔ 2۔
ਦਾਰਨ ਦੁਖ ਦੁਤਰ ਸੰਸਾਰੁ ॥ اے لوگو! یہ مشکل دنیاوی سمندر خوفناک مصائب سے بھرا ہوا ہے۔
ਰਾਮ ਨਾਮ ਬਿਨੁ ਕੈਸੇ ਉਤਰਸਿ ਪਾਰਿ ॥੩॥ رام نام کے بغیر انسان اس سے کس طرح پار ہوگا؟3۔
ਸਾਧਸੰਗਿ ਮਿਲਿ ਦੁਇ ਕੁਲ ਸਾਧਿ ॥ ست سنگ میں وقت دے کر اپنی دنیا و آخرت دونوں سنوارلو۔
ਰਾਮ ਨਾਮ ਨਾਨਕ ਆਰਾਧਿ ॥੪॥੯੭॥੧੬੬॥ اے نانک! رام کے نام کا بھجن کر۔ 4۔ 97۔ 166۔
ਗਉੜੀ ਮਹਲਾ ੫ ॥ گؤڑی محلہ 5۔
ਗਰੀਬਾ ਉਪਰਿ ਜਿ ਖਿੰਜੈ ਦਾੜੀ ॥ اے لوگو! جو داڑھی غریبوں کو تنگ کرتی رہتی ہے،
ਪਾਰਬ੍ਰਹਮਿ ਸਾ ਅਗਨਿ ਮਹਿ ਸਾੜੀ ॥੧॥ اس داڑھی کو پاربرہما رب نے آگ میں جلادیا ہے (یعنی جو شخص غصے میں آکر تکبر سے دوسروں کو ستاتا ہے، وہ خود بھی غصے کی آگ میں جلتا رہتا ہے)۔ 1۔
ਪੂਰਾ ਨਿਆਉ ਕਰੇ ਕਰਤਾਰੁ ॥ کائنات کا خالق رب مکمل انصاف کرتا ہے۔
ਅਪੁਨੇ ਦਾਸ ਕਉ ਰਾਖਨਹਾਰੁ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥ وہ اپنے خادموں کا محافظ ہے۔ 1۔ وقفہ۔
ਆਦਿ ਜੁਗਾਦਿ ਪ੍ਰਗਟਿ ਪਰਤਾਪੁ ॥ اے لوگو! ابتدائے تخلیق سے لے کر زمانوں کے آغاز سے ہی رب کی شان ظاہر ہے۔
ਨਿੰਦਕੁ ਮੁਆ ਉਪਜਿ ਵਡ ਤਾਪੁ ॥੨॥ برائی کرنے والا شخص سخت گرمی سے موت کو گلے لگاتا ہے۔ 2۔
ਤਿਨਿ ਮਾਰਿਆ ਜਿ ਰਖੈ ਨ ਕੋਇ ॥ اسے اس رب نے ماردیا ہے، جسے کوئی نہیں بچاسکتا۔
ਆਗੈ ਪਾਛੈ ਮੰਦੀ ਸੋਇ ॥੩॥ ایسے شخص کی دنیا و آخرت میں بدنامی ہی ہوتی ہے۔ 3۔
ਅਪੁਨੇ ਦਾਸ ਰਾਖੈ ਕੰਠਿ ਲਾਇ ॥ اے نانک! رب اپنے خادموں کو اپنی بہت ہی قریب رکھتا ہے۔
ਸਰਣਿ ਨਾਨਕ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਧਿਆਇ ॥੪॥੯੮॥੧੬੭॥ ہمیں رب کی ہی پناہ لینی چاہیے اور رب کے نام پر غور کرنا چاہیے۔ 4۔ 98۔ 167۔
ਗਉੜੀ ਮਹਲਾ ੫ ॥ گؤڑی محلہ 5۔
ਮਹਜਰੁ ਝੂਠਾ ਕੀਤੋਨੁ ਆਪਿ ॥ واہے گرو نے خود دعوے کو جھوٹا ثابت کردیا ہے۔
ਪਾਪੀ ਕਉ ਲਾਗਾ ਸੰਤਾਪੁ ॥੧॥ مجرم مشکل میں آگیا ہے۔ 1۔
ਜਿਸਹਿ ਸਹਾਈ ਗੋਬਿਦੁ ਮੇਰਾ ॥ میرا گووند جس کا مددگار ہے۔
ਤਿਸੁ ਕਉ ਜਮੁ ਨਹੀ ਆਵੈ ਨੇਰਾ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥ موت اس کے قریب بھی نہیں آتی۔ 1۔ وقفہ۔
ਸਾਚੀ ਦਰਗਹ ਬੋਲੈ ਕੂੜੁ ॥ جاہل احمق انسان رب کے سچے دربار میں جھوٹ بولتا ہے۔
ਸਿਰੁ ਹਾਥ ਪਛੋੜੈ ਅੰਧਾ ਮੂੜੁ ॥੨॥ اور اپنا سر اپنے ہاتھوں سے پیٹتا ہے۔ 2۔
ਰੋਗ ਬਿਆਪੇ ਕਰਦੇ ਪਾਪ ॥ جو لوگ گناہ کرتے رہتے ہیں،وہ بہت سی بیماریوں کے شکار ہوجاتے ہیں۔
ਅਦਲੀ ਹੋਇ ਬੈਠਾ ਪ੍ਰਭੁ ਆਪਿ ॥੩॥ رب خود ہی فیصل بن کر بیٹھا ہوا ہے۔ 3۔
ਅਪਨ ਕਮਾਇਐ ਆਪੇ ਬਾਧੇ ॥ انسان اپنے اعمال کی وجہ سے خود ہی بندھ گیا ہے۔
ਦਰਬੁ ਗਇਆ ਸਭੁ ਜੀਅ ਕੈ ਸਾਥੈ ॥੪॥ تمام مال و جائیداد زندگی (سانسوں)کے ساتھ ہی چلاجاتا ہے۔ 4۔
ਨਾਨਕ ਸਰਨਿ ਪਰੇ ਦਰਬਾਰਿ ॥ اے نانک! جنہوں نے رب کی بارگاہ میں پناہ لی ہے۔
ਰਾਖੀ ਪੈਜ ਮੇਰੈ ਕਰਤਾਰਿ ॥੫॥੯੯॥੧੬੮॥ میرے خالق کائنات نے ان کی عزت رکھ لی ہے۔5۔99۔168۔
ਗਉੜੀ ਮਹਲਾ ੫ ॥ گؤڑی محلہ 5۔
ਜਨ ਕੀ ਧੂਰਿ ਮਨ ਮੀਠ ਖਟਾਨੀ ॥ اس انسان کے دل کو واہے گرو کے قدموں کی دھول ہی پیاری لگتی ہے۔"
ਪੂਰਬਿ ਕਰਮਿ ਲਿਖਿਆ ਧੁਰਿ ਪ੍ਰਾਨੀ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥ جس کی پیشانی پر پچھلے جنم میں کیے گئے اعمال کے مطابق شروع سے لکھا ہوا ہوتا ہے۔ 1۔ وقفہ۔
error: Content is protected !!
Scroll to Top
https://ijwem.ulm.ac.id/pages/demo/ slot gacor https://andong-butuh.purworejokab.go.id/resources/demo/ https://triwarno-banyuurip.purworejokab.go.id/assets/files/demo/ https://bppkad.mamberamorayakab.go.id/wp-content/modemo/ http://mesin-dev.ft.unesa.ac.id/mesin/demo-slot/ http://gsgs.lingkungan.ft.unand.ac.id/includes/demo/ https://kemahasiswaan.unand.ac.id/plugins/actionlog/
https://jackpot-1131.com/ https://mainjp1131.com/ https://triwarno-banyuurip.purworejokab.go.id/template-surat/kk/kaka-sbobet/
https://ijwem.ulm.ac.id/pages/demo/ slot gacor https://andong-butuh.purworejokab.go.id/resources/demo/ https://triwarno-banyuurip.purworejokab.go.id/assets/files/demo/ https://bppkad.mamberamorayakab.go.id/wp-content/modemo/ http://mesin-dev.ft.unesa.ac.id/mesin/demo-slot/ http://gsgs.lingkungan.ft.unand.ac.id/includes/demo/ https://kemahasiswaan.unand.ac.id/plugins/actionlog/
https://jackpot-1131.com/ https://mainjp1131.com/ https://triwarno-banyuurip.purworejokab.go.id/template-surat/kk/kaka-sbobet/