Urdu-Page-347

SGGS Page 347
 ਸਤਿ ਨਾਮੁ ਕਰਤਾ ਪੁਰਖੁ ਨਿਰਭਉ ਨਿਰਵੈਰੁ ਅਕਾਲ ਮੂਰਤਿ ਅਜੂਨੀ ਸੈਭੰ ਗੁਰ ਪ੍ਰਸਾਦਿ 
ik-oNkaar sat naam kartaa purakh nirbha-o nirvair akaal moorat ajoonee saibhaN gur parsaad.
There is only one God whose Name is ‘of eternal existence’. He is the creator of the universe, all-pervading, without fear, without enmity, independent of time, beyond the cycle of birth and death and self revealed. He is realized by the Guru’s grace.
ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ ਇੱਕ ਹੈਜਿਸ ਦਾ ਨਾਮ ਹੋਂਦ ਵਾਲਾ‘ ਹੈ ਜੋ ਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀ ਦਾ ਰਚਨਹਾਰ ਹੈਜੋ ਸਭ ਵਿਚ ਵਿਆਪਕ ਹੈਭੈ ਤੋਂ ਰਹਿਤ ਹੈਵੈਰਰਹਿਤ ਹੈਜਿਸ ਦਾ ਸਰੂਪ ਕਾਲ ਤੋਂ ਪਰੇ ਹੈ, (ਭਾਵਜਿਸ ਦਾ ਸਰੀਰ ਨਾਸਰਹਿਤ ਹੈ), ਜੋ ਜੂਨਾਂ ਵਿਚ ਨਹੀਂ ਆਉਂਦਾਜਿਸ ਦਾ ਪ੍ਰਕਾਸ਼ ਆਪਣੇ ਆਪ ਤੋਂ ਹੋਇਆ ਹੈ ਅਤੇ ਜੋ ਸਤਿਗੁਰੂ ਦੀ ਕਿਰਪਾ ਨਾਲ ਮਿਲਦਾ ਹੈ 
 ستِنامُ کرتا پُرکھُ نِربھءُ نِرۄیَرُ اکال موُرتِ اجوُنیِ سیَبھنّ گُرپ٘رسادِ
صرف ایک ہی خدا ہے جس کا نام ہے دائمی وجود کا۔ وہ کائنات کا خالق ہے ، ہمہ جہت ، بے خوف ، بغیر کسی دشمنی کے ، وقت سے آزاد ، پیدائش اور موت اور خود سے ظاہر ہونے کے چکر سے پرے۔ وہ گرو کے فضل سے محسوس ہوا ہے


ਰਾਗੁ ਆਸਾ ਮਹਲਾ  ਘਰੁ  ਸੋ ਦਰੁ 
raag aasaa mehlaa 1 ghar 1 so dar.
Raag Aasaa, First Guru, First beat, So Dar
 راگُ آسا مہلا  گھرُ  سو درُ 
ਸੋ ਦਰੁ ਤੇਰਾ ਕੇਹਾ ਸੋ ਘਰੁ ਕੇਹਾ ਜਿਤੁ ਬਹਿ ਸਰਬ ਸਮ੍ਹ੍ਹਾਲੇ 
so dar tayraa kayhaa so ghar kayhaa jit bahi sarab samHaalay.
O’ God, wonderful is that abode from where you are taking care of all ?
ਉਹ ਦਰਘਰ ਬੜਾ ਹੀ ਅਸਚਰਜ ਹੈਜਿਥੇ ਬੈਠ ਕੇ (ਹੇ ਨਿਰੰਕਾਰ!) ਤੂੰ ਸਾਰੇ ਜੀਵਾਂ ਦੀ ਸੰਭਾਲ ਕਰ ਰਿਹਾ ਹੈਂ
سو درُ تیرا کیہا سو گھرُ کیہا جِتُ بہِ سرب سم٘ہ٘ہالے 
کبہا۔ کیسا ۔دردروازہ ۔جت۔جہاں ۔ سرب ۔ سارے سمالے۔ سنبھالتا ۔ خبر گیری کرتاہے
کیسا ہے وہ مقام جہاں سے تو سب کی نگرانی و خبر گیری کرتاہے ۔ 


ਵਾਜੇ ਤੇਰੇ ਨਾਦ ਅਨੇਕ ਅਸੰਖਾ ਕੇਤੇ ਤੇਰੇ ਵਾਵਣਹਾਰੇ 
vaajay tayray naad anayk asankhaa kaytay tayray vaavanhaaray.
Countless musicians are playing countless musical instruments producing countless melodies.
ਤੇਰੀ ਇਸ ਰਚੀ ਹੋਈ ਕੁਦਰਤਿ ਵਿਚ ਅਨੇਕਾਂ ਤੇ ਅਣਗਿਣਤ ਵਾਜੇ ਤੇ ਰਾਗ ਹਨਬੇਅੰਤ ਹੀ ਜੀਵ ਉਹਨਾਂ ਵਾਜਿਆਂ ਨੂੰ ਵਜਾਣ ਵਾਲੇ ਹਨ
 ۄاجے تیرے ناد انیک اسنّکھا کیتے تیرے ۄاۄنھہارے 
ناد۔ آواز۔ باونہارے۔ بجانے والے ۔ سیؤ۔ معہ
اے خدا تیری کائنات قدرت مین بے شمار راگ اور ساز ہیں اور بیشمار ہی انہیں بجانےوالے ہیں۔


ਕੇਤੇ ਤੇਰੇ ਰਾਗ ਪਰੀ ਸਿਉ ਕਹੀਅਹਿ ਕੇਤੇ ਤੇਰੇ ਗਾਵਣਹਾਰੇ 
kaytay tayray raag paree si-o kahee-ahi kaytay tayray gaavanhaaray.
So many minstrels sing to You in so many musical measures along with their accompanying harmonies.
ਰਾਗਣੀਆਂ ਸਣੇ ਬੇਅੰਤ ਹੀ ਰਾਗ ਕਹੇ ਜਾਂਦੇ ਹਨ ਅਤੇ ਅਨੇਕਾਂ ਹੀ ਜੀਵ (ਇਹਨਾਂ ਰਾਗਾਂ ਦੇਗਾਵਣ ਵਾਲੇ ਹਨ (ਜੋ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ) 
 کیتے تیرے راگ پریِ سِءُ کہیِئہِ کیتے تیرے گاۄنھہارے 
پری سیؤ۔ مورگنیا۔ کہیئے ۔ کہتے ہیں۔
معہ راگنیاں بیشمار راگ ہو رہے ہیں۔ کتنے ہی راگ کرنے والے ہیں۔


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਪਉਣੁ ਪਾਣੀ ਬੈਸੰਤਰੁ ਗਾਵੈ ਰਾਜਾ ਧਰਮ ਦੁਆਰੇ 
gaavniH tuDhno pa-un paanee baisantar gaavai raajaa Dharam du-aaray.
The air, the water and the fire are singing Your praises by performing their assigned duties; the righteous judge is singing Your praises at Your doorstep.
(ਹੇ ਨਿਰੰਕਾਰ!) ਹਵਾਪਾਣੀਅੱਗ ਤੇਰੇ ਗੁਣ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ ਧਰਮਰਾਜ ਤੇਰੇ ਦਰ ਤੇ (ਖਲੋ ਕੇਤੈਨੂੰ ਵਡਿਆਇ ਰਿਹਾ ਹੈ
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو پئُنھُ پانھیِ بیَسنّترُ گاۄےَ راجا دھرم دُیارے
یا رب: ہوا آگ اور پانی بھی تیری ہی حمد کر رہے ہیں۔ دھرم راج الہٰی مصنف بھی تیری ہی حمد وثناہ کر رہا ہے


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਚਿਤੁ ਗੁਪਤੁ ਲਿਖਿ ਜਾਣਨਿ ਲਿਖਿ ਲਿਖਿ ਧਰਮੁ ਵੀਚਾਰੇ 
 gaavniH tuDhno chit gupat likh jaanan likh likh Dharam veechaaray.
 Also singing of You are the mythical angels, Chitar and Gupat, who know and record the deeds of human beings and on the basis of these writings the righteous judge passes judgement.
ਉਹ ਚਿਤ੍ਰਗੁਪਤ ਭੀ ਜੋ (ਜੀਵਾਂ ਦੇ ਚੰਗੇ ਮੰਦੇ ਕਰਮਾਂ ਦੇ ਲੇਖੇਲਿਖਣੇ ਜਾਣਦੇ ਹਨ ਅਤੇ ਜਿਨ੍ਹਾਂ ਦੇ ਲਿਖੇ ਹੋਏ ਲੇਖੇ ਧਰਮਰਾਜ ਵਿਚਾਰਦਾ ਹੈਤੇਰੀਆਂ ਵਡਿਆਈਆਂ ਕਰ ਰਹੇ ਹਨ 
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو چِتُ گُپتُ لِکھِ جانھنِ لِکھِ لِکھِ دھرمُ ۄیِچارے 
چت گپت ۔ جاسوس الہٰی ۔ دھرم ویچار ۔ فرائض انسانی یا اعمال انسانی کی نیک و بد کی تمیز و تحقیق
الہٰی جاسوس جو انسانوں کے نیک و بد اعمال لکھنے والے ہیں وہ بھی تیری صفت صلاح کر رہے ہیں۔


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਈਸਰੁ ਬ੍ਰਹਮਾ ਦੇਵੀ ਸੋਹਨਿ ਤੇਰੇ ਸਦਾ ਸਵਾਰੇ 
gaavniH tuDhno eesar barahmaa dayvee sohan tayray sadaa savaaray.
The Shiva, the Brahma and the goddess Parvati, so beautiful and ever adorned by You are also singing Your praises.
(ਹੇ ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ!) ਦੇਵੀਆਂਸ਼ਿਵ ਤੇ ਬ੍ਰਹਮਾ ਜੋ ਤੇਰੇ ਸਵਾਰੇ ਹੋਏ ਹਨ ਤੇ ਸੋਭ ਰਹੇ ਹਨਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو ایِسرُ ب٘رہما دیۄیِ سوہنِ تیرے سدا سۄارے
ایشر۔ شوجی۔ دیوی۔ دیویاں۔ سوہن۔ اچھے لگتے ہیں۔
اے خدا۔ شوجی برہما اور دیویاں جو تیری پیدا کی ہوئی ہیں تیری در کی شان اور شہرت نہیں۔ تیری ہی توصفت کر رہی ہی


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਇੰਦ੍ਰ ਇੰਦ੍ਰਾਸਣਿ ਬੈਠੇ ਦੇਵਤਿਆ ਦਰਿ ਨਾਲੇ 
gaavniH tuDhno indar indaraasan baithay dayviti-aa dar naalay.
The Indras seated upon their celestial thrones with the deities are singing Your praises at Your doorstep.
ਕਈ ਇੰਦ੍ਰ ਆਪਣੇ ਤਖ਼ਤ ਉਤੇ ਬੈਠੇ ਹੋਏ ਦੇਵਤਿਆਂ ਸਮੇਤ ਤੇਰੇ ਦਰ ਤੇ ਤੈਨੂੰ ਸਾਲਾਹ ਰਹੇ ਹਨ
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو اِنّد٘ر اِنّد٘راسنھِ بیَٹھے دیۄتِیا درِ نالے 
اندر آسن ۔ اندر اپنے جگہ یا مسند پر۔ دیوتیاں درنالے ۔ دیوتاؤں کے ساتھ ۔
اور اندر بھی اپنے مسند پر بمعہ دیوتاوں کے تیری ہی صفت صلاح کر رہا ہے۔


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਸਿਧ ਸਮਾਧੀ ਅੰਦਰਿ ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਸਾਧ ਬੀਚਾਰੇ 
gaavniH tuDhno siDh samaaDhee andar gaavniH tuDhno saaDh beechaaray.
The siddhas absorbed in meditation are singing of You and so are other saints who keep reflecting on Your countless virtues.
ਸਿੱਧ ਲੋਕ ਸਮਾਧੀਆਂ ਲਾ ਕੇ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨਸਾਧ ਵਿਚਾਰ ਕਰ ਕਰ ਕੇ ਤੈਨੂੰ ਸਾਲਾਹ ਰਹੇ ਹਨ
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو سِدھ سمادھیِ انّدرِ گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو سادھ بیِچارے 
تدھنوں ۔تجے۔ مجھے ۔ سدھ ۔جنہوں نے صراط مسقتیم دریافت کر لیا۔ جنہوں نے اپنا دامن پاک بنایا۔ جنہوں نے اپنی زندگی کا سقر پاک بنالیا۔ سمادھی۔ ذہن کی مرکزیت ۔ توجہ یا دھیان مرکوز کرنا۔ سادھ۔ پاکدامن ۔
پاکدامن انسان اپنی توجہ اور دھیان مرکوز کرکے یکجا یکسو کرکے تیری حمد و ثناہ کر رہے ہیں۔ پاکدامن تری صفت کر رہے ہیں۔


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਜਤੀ ਸਤੀ ਸੰਤੋਖੀ ਗਾਵਨਿ ਤੁਧਨੋ ਵੀਰ ਕਰਾਰੇ 
gaavniH tuDhno jatee satee santokhee gaavan tuDhno veer karaaray
 The celibates, the benevolent, the contented, and the mighty warriors are singing Your praises.
ਜਤਧਾਰੀਦਾਨ ਕਰਨ ਵਾਲੇ ਤੇ ਸੰਤੋਖ ਵਾਲੇ ਪੁਰਸ਼ਅਤੇ ਬੇਅੰਤ ਤਕੜੇ ਸੂਰਮੇ ਤੇਰੀਆਂ ਵਡਿਆਈਆਂ ਕਰ ਰਹੇ ਹਨ 
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو جتیِ ستیِ سنّتوکھیِ گاۄنِ تُدھنو ۄیِر کرارے 
ستی ۔ ست سچ قوت ۔ جتی شہوت پر ضبط رکھنے والے ۔ سنتو کہی۔ صاحب ۔ دیر کرارہے ۔جنگجو۔ بہادر۔
شہوت پر ضبط رکھنے والے یا قوت اور سچے انسان صابر بھی تیری ہی ثناہ میں مصروف ہیں اور جنگجو اور بہادر بھی تیری حمد گار رہے ہیں۔


ਗਾਵਨਿ ਤੁਧਨੋ ਪੰਡਿਤ ਪੜੇ ਰਖੀਸੁਰ ਜੁਗੁ ਜੁਗੁ ਬੇਦਾ ਨਾਲੇ 
gaavan tuDhno pandit parhay rakheesur jug jug baydaa naalay.
O’ God, age after age, the widely read pundits and the great sages along with their Vedas are singing Your praise.
(ਹੇ ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ!) ਪੜ੍ਹੇ ਹੋਏ ਪੰਡਿਤ ਤੇ ਮਹਾ ਰਿਖੀ ਵੇਦਾਂ ਸਣੇ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ
 گاۄنِ تُدھنو پنّڈِت پڑے رکھیِسُر جُگُ جُگُ بیدا نالے 
پنڈت۔ عالم۔ پڑھے لکھے ۔ پڑھے ہوئے رکھیسر۔ رشی منی۔ جگ جگ۔ ہر دور زماں میں۔ ویداں نالے۔ بمعہ وید
اے خدا: پڑھے لکھے عالم فاضل اور رشی منی نبیاولیئے معہ مذہبی کتابوں کے تیری ہی صفت گار ہے ہیں۔ 


ਗਾਵਨਿ ਤੁਧਨੋ ਮੋਹਣੀਆ ਮਨੁ ਮੋਹਨਿ ਸੁਰਗੁ ਮਛੁ ਪਇਆਲੇ 
gaavniH tuDhno mohnee-aa man mohan surag machh pa-i-aalay.
The heart captivating beauties of the (mythical) paradise, this world and the nether regions are singing Your praises.
ਸੁੰਦਰ ਇਸਤ੍ਰੀਆਂ ਜੋ ਮਨ ਨੂੰ ਮੋਂਹਦੀਆਂ ਹਨਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੀਆਂ ਹਨਸੁਰਗਲੋਕਮਾਤਲੋਕਪਾਤਾਲਲੋਕ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ
 گاۄنِ تُدھنو موہنھیِیا منُ موہنِ سُرگُ مچھُ پئِیالے 
۔ موہنیاں دل پسند۔ دلربا۔ دل کی کشش ہو جن کے لئے مچھ۔ یہ عالم۔ جہاں دنیاں۔ پیالے ۔ پاتال۔ زیر زمین۔
خوبصورت عورتیں جومن کو لبھاتی ہیں۔اور بہشتی اور اس عالم کے لوگ اور زیر زمین رہنے والے بھی تیری ہی حمد وثناہ کر رہے ہیں۔


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਰਤਨ ਉਪਾਏ ਤੇਰੇ ਜੇਤੇ ਅਠਸਠਿ ਤੀਰਥ ਨਾਲੇ 
gaavniH tuDhno ratan upaa-ay tayray jaytay athsath tirath naalay.
All the priceless jewels created by You along with the sixty-eight holy places of pilgrimage are singing Your praises.
(ਹੇ ਨਿਰੰਕਾਰ!) ਜਿਤਨੇ ਭੀ ਤੇਰੇ ਪੈਦਾ ਕੀਤੇ ਹੋਏ ਰਤਨ ਹਨਉਹ ਅਠਾਹਠ ਤੀਰਥਾਂ ਸਮੇਤ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو رتن اُپاۓ تیرے جیتے اٹھسٹھِ تیِرتھ نالے 
رتن۔ قیمتی اشیاء ۔ قیمتی پتھر۔ اُپائے پیدا کئے ہوئے ۔ جیتے ۔جتنے ۔
اے خدا جتنے بھی تو نے قیمتی اشیائ ہیرے جواہرات بمعہ اڑسٹھ زیارت گاہوں کے تیری تعریف کر رہے ہیں۔ 


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਜੋਧ ਮਹਾਬਲ ਸੂਰਾ ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਖਾਣੀ ਚਾਰੇ 
gaavniH tuDhno joDh mahaabal sooraa gaavniH tuDhno khaanee chaaray.
The great warriors, the brave men and the creation from all the four sources of life are singing Your praise.
ਵੱਡੇ ਬਲ ਵਾਲੇ ਜੋਧੇ ਤੇ ਸੂਰਮੇ ਤੇਰੀ ਸਿਫ਼ਤਿ ਕਰ ਰਹੇ ਹਨ ਚੌਹਾਂ ਹੀ ਖਾਣੀਆਂ ਦੇ ਜੀਅ ਜੰਤ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨ 
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو جودھ مہابل سوُرا گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو کھانھیِ چارے 
اٹھ سٹھ تیرتھ نالے ۔ معہ اڑسٹھ زیارت گاہوں کے ۔ جودھ مہاں بل سور ۔ جنگجو بہادر۔ کھاتی چارے چاروں کانیں۔ دھارے ۔ٹکائے ہوئے۔
بھاری جنگجو ار بہادر تیری صفت کر رہے ہیں۔سارا عالم جسے جہاں اور براعظم جنکو تو نے پیدا کرکے قائم کئے ہوئے ہیں تیری ہی حمد گارہے ہیں۔


ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਤੁਧਨੋ ਖੰਡ ਮੰਡਲ ਬ੍ਰਹਮੰਡਾ ਕਰਿ ਕਰਿ ਰਖੇ ਤੇਰੇ ਧਾਰੇ 
gaavniH tuDhno khand mandal barahmandaa kar kar rakhay tayray Dhaaray.
The continents, the worlds and the solar systems created and supported by You are singing Your praises.
ਸਾਰੀ ਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀ ਦੇ ਸਾਰੇ ਖੰਡ ਅਤੇ ਚੱਕ੍ਰਜੋ ਤੂੰ ਪੈਦਾ ਕਰ ਕੇ ਟਿਕਾ ਰੱਖੇ ਹਨਤੈਨੂੰ ਗਾਉਂਦੇ ਹਨ
 گاۄن٘ہ٘ہِ تُدھنو کھنّڈ منّڈل ب٘رہمنّڈا کرِ کرِ رکھے تیرے دھارے 
تیرے بنائے ہوئے براعظم ، جہان اور نظام شمسی آپ کی مدح سرائی کر رہے ہیں


ਸੇਈ ਤੁਧਨੋ ਗਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਜੋ ਤੁਧੁ ਭਾਵਨ੍ਹ੍ਹਿ ਰਤੇ ਤੇਰੇ ਭਗਤ ਰਸਾਲੇ 
say-ee tuDhno gaavniH jo tuDh bhaavniH ratay tayray bhagat rasaalay.
O’ God, only those who are pleasing to You are eulogising You and these are Your true devotees who are imbued with Your love.
ਹੇ ਅਕਾਲ ਪੁਰਖਅਸਲ ਵਿਚ ਤਾਂ ਉਹੋ ਤੇਰੇ ਪ੍ਰੇਮ ਵਿਚ ਰੱਤੇ ਰਸੀਏ ਭਗਤ ਜਨ ਤੈਨੂੰ ਗਾਉਂਦੇ ਹਨ ਜੋ ਤੈਨੂੰ ਚੰਗੇ ਲੱਗਦੇ ਹਨ 
 سیئیِ تُدھنو گاۄن٘ہ٘ہِ جو تُدھُ بھاۄن٘ہ٘ہِ رتے تیرے بھگت رسالے 
تدھتوں ۔ تجھے ۔ بھاون۔ جنہیں تو چاہتا ہے۔ رتے۔تجھ میں مجذوب ۔ بھگت ۔ پیار عشق ۔ رسائے رس میں۔ ضایقے او مزے ہین
اے خدا وہی تیرے عشق و محبت میں تیری حمد وثناہ کرتے ہیں جو تجھے پیارے ہیں جنہیں تو چاہتا ہے ۔


ਹੋਰਿ ਕੇਤੇ ਤੁਧਨੋ ਗਾਵਨਿ ਸੇ ਮੈ ਚਿਤਿ  ਆਵਨਿ ਨਾਨਕੁ ਕਿਆ ਬੀਚਾਰੇ 
hor kaytay tuDhno gaavan say mai chit na aavan naanak ki-aa beechaaray.
So many others sing Your praises, which I cannot even count in my mind; how can Nanak think of them?
ਅਨੇਕਾਂ ਹੋਰ ਜੀਵ ਤੈਨੂੰ ਗਾ ਰਹੇ ਹਨਜੇਹੜੇ ਮੈਥੋਂ ਗਿਣੇ ਭੀ ਨਹੀਂ ਜਾ ਸਕਦੇ ਨਾਨਕ ਉਨ੍ਹਾਂ ਦਾ ਕੀਹ ਵਿਚਾਰ ਕਰ ਸਕਦਾ ਹੈ?
 ہورِ کیتے تُدھنو گاۄنِ سے مےَ چِتِ ن آۄنِ نانکُ کِیا بیِچارے 
۔ ہو رکیتے ۔ اور کتنے ہی ۔ سے میں چت نہ آون۔ جو میرے ذہن یا یاد نہیں آرہے ۔ نانک کیا وچارے ۔ نانک اس کی بابت کیا سوچے۔
بیشمار تیری حمد و ثناہ کر رہے ہیں جومجھے یاد نہیں آرہے ۔ نانک اسے کیا سمجھ سکتا ہے ۔ 


ਸੋਈ ਸੋਈ ਸਦਾ ਸਚੁ ਸਾਹਿਬੁ ਸਾਚਾ ਸਾਚੀ ਨਾਈ 
so-ee so-ee sadaa sach saahib saachaa saachee naa-ee.
God is eternal and everlasting is His glory.
ਉਹ ਪਰਮਾਤਮਾ ਸਦਾਥਿਰ ਹੈਉਹ ਮਾਲਕ ਸੱਚਾ ਹੈਉਸ ਦੀ ਵਡਿਆਈ ਭੀ ਸਦਾ ਅਟੱਲ ਹੈ 
 سوئیِ سوئیِ سدا سچُ ساہِبُ ساچا ساچیِ نائیِ 
سوئی سوئی ۔ وہی وہی ۔ سدا۔ ہمیشہ ۔ سچ ۔اصل۔ حقیقت ۔ ساچا۔ سچا۔ حقیقت ۔صدیوی ۔ساچی نائے ۔ سچی شہرت سچا نام۔ ہے بھی جواب بھی ہے ۔
وہ ہمیشہ سچا مالک سچا اور سچے نام و شہرت والا ہے


ਹੈ ਭੀ ਹੋਸੀ ਜਾਇ  ਜਾਸੀ ਰਚਨਾ ਜਿਨਿ ਰਚਾਈ 
hai bhee hosee jaa-ay na jaasee rachnaa jin rachaa-ee.
God who has created the creation is present now, He would always be here and would never depart.
ਜਿਸ ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ ਨੇ ਇਹ ਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀ ਪੈਦਾ ਕੀਤੀ ਹੈ ਉਹ ਐਸ ਵੇਲੇ ਮੌਜੂਦ ਹੈਸਦਾ ਰਹੇਗਾਨਾਹ ਉਹ ਜੰਮਿਆ ਹੈ ਅਤੇ ਨਾਹ ਹੀ ਉਹ ਮਰੇਗਾ
 ہےَ بھیِ ہوسیِ جاءِ ن جاسیِ رچنا جِنِ رچائیِ 
ہوسی آیندہ ۔ مستقبل میں بھی ہوگا۔ جائے نہ جاسی ۔ نہ اب نہ آئندہ فنا ہوگا۔ مٹیگا ۔ رچنا جن رچائی ۔ جس نے قائنات قدرت پیدا کی ہے
وہ آج بھی ہے آئندہ مستقبل میں بھی ہوگا۔ مٹتا نہیں نہ مٹے گا


ਰੰਗੀ ਰੰਗੀ ਭਾਤੀ ਜਿਨਸੀ ਮਾਇਆ ਜਿਨਿ ਉਪਾਈ 
rangee rangee bhaatee jinsee maa-i-aa jin upaa-ee.
That God who has created this world of Maya with its various colors and species
ਜਿਸ ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ ਨੇ ਕਈ ਰੰਗਾਂਕਿਸਮਾਂ ਅਤੇ ਜਿਨਸਾਂ ਦੀ ਮਾਇਆ ਰਚ ਦਿੱਤੀ ਹੈ,
 رنّگیِ رنّگیِ بھاتیِ جِنسیِ مائِیا جِنِ اُپائیِ 
رنگی رنگی ۔ بیشمار قسم کی۔ بھاتی۔ بھانت ۔ قسم جنسی نسل جن اُپائی ۔ جس نے پیدا کی
جس نے بے شمار قسم کی یہ کائنات قدرت پیدا کی ہے۔


ਕਰਿ ਕਰਿ ਦੇਖੈ ਕੀਤਾ ਅਪਣਾ ਜਿਉ ਤਿਸ ਦੀ ਵਡਿਆਈ 
kar kar daykhai keetaa apnaa ji-o tis dee vadi-aa-ee.
Having created the creation He watches over it as it suits His glory.
ਉਹ ਜਿਵੇਂ ਉਸ ਦੀ ਰਜ਼ਾ ਹੈ ਆਪਣੇ ਪੈਦਾ ਕੀਤੇ ਹੋਏ ਦੀ ਸੰਭਾਲ ਭੀ ਕਰ ਰਿਹਾ ਹੈ
 کرِ کرِ دیکھےَ کیِتا اپنھا جِءُ تِس دیِ ۄڈِیائیِ 
۔ دیکھے کیتا اپنا پیدا کئے ہوئے کو کرکر۔ پیدا کرکے دیکھئے ۔ خبر گیری کرتا ہے ۔جیؤ تس دی ۔ وڈیائی ۔ یہی اس کی عظمت ہے ۔
طرح طرح کی بیشمار رنگوں اور نسلوں والی جس نے پیدا کی ہے وہ اپنے کئے ہوئے کا نگران اور خبر گیر ہے یہی اس کی عظمت و صفت بھی ہے ۔


ਜੋ ਤਿਸੁ ਭਾਵੈ ਸੋਈ ਕਰਸੀ ਫਿਰਿ ਹੁਕਮੁ  ਕਰਣਾ ਜਾਈ 
jo tis bhaavai so-ee karsee fir hukam na karnaa jaa-ee.
He does whatever pleases Him; no one can issue any commands to Him.
ਜੋ ਕੁਝ ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ ਨੂੰ ਭਾਉਂਦਾ ਹੈਉਹੋ ਹੀ ਉਹ ਕਰੇਗਾ ਕਿਸੇ ਜੀਵ ਪਾਸੋਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਅਗੇ ਹੁਕਮ ਨਹੀਂ ਕੀਤਾ ਜਾ ਸਕਦਾ,
 جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ کرسیِ پھِرِ ہُکمُ ن کرنھا جائیِ 
۔تس بھاوے ۔ جو اسے اچھا لگتا ہے ۔ سوئی ۔ کرسی۔ وہی کرتا ہے ۔ پھر دوبارہ حکم نہ کرنا جائی ۔ اُسے کوئی حکم نہیں کر سکتا ۔ وہ کسی کے زیر فرمان نہیں ہے ۔
جیسی اس کی رضا اور آزاد مرضی ہے وہی کرتا ہے کوئی اسے حکم جاری کرنے والا نہیں۔ 


ਸੋ ਪਾਤਿਸਾਹੁ ਸਾਹਾ ਪਤਿ ਸਾਹਿਬੁ ਨਾਨਕ ਰਹਣੁ ਰਜਾਈ 
so paatisaahu saahaa pat saahib naanak rahan rajaa-ee. ||1||1||
O’ Nanak, God is the sovereign king and it behooves to live according to His will.
ਹੇ ਨਾਨਕਅਕਾਲ ਪੁਰਖ ਪਾਤਸ਼ਾਹ ਹੈਸ਼ਾਹਾਂ ਦਾ ਸ਼ਾਹ ਹੈਮਾਲਕ ਹੈ ਉਸ ਦੀ ਰਜ਼ਾ ਵਿਚ ਰਹਿਣਾ ਹੀ ਫੱਬਦਾ ਹੈ 
سو پاتِساہُ ساہا پتِ ساہِبُ نانک رہنھُ رجائیِ
سووہ۔ پاتشاہ ساہاپت صاحب ۔ وہ بادشاہوں کا بادشاہ یعنی شہنشاہ ہے ۔ نانک رہن رجائی ۔ نانک اس کی رضا یعنی مرضی میں رہتا ہے ۔
وہ بادشاہوں کا بادشاہ اور شنہشاہ ہے ۔ نانک اس کی رضا یعنی مرضی میں رہتا ہے