Urdu-Raw-Page-932

ਤਾਮਿਲੀਐਜਾਲਏਮਿਲਾਇ॥
taa milee-ai jaa la-ay milaa-ay.
One can unite with Him only when God Himself unites with Him.
ਉਸਪ੍ਰਭੂਨੂੰਤਦੋਂਹੀਮਿਲਸਕੀਦਾਹੈਜੇਉਹਆਪਮਿਲਾਲਏ।
تامِلیِئےَجالۓمِلاءِ॥
اسکا ملاپ تبھی حاصل ہو سکتا ہے اگر خدا خود ملائے ۔

ਗੁਣਵੰਤੀਗੁਣਸਾਰੇਨੀਤ॥
gunvantee gun saaray neet.
Only a rare virtuous soul-bride continuously contemplates God’s virtues.
ਕੋਈਭਾਗਾਂਵਾਲੀਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਗੋਪਾਲਦੇਗੁਣਸਦਾਚੇਤੇਰੱਖਦੀਹੈ।
گُنھۄنّتیِگُنھسارےنیِت॥
گن سارے ۔ اوصاف قائم رکھنا۔ نیت ۔ ہر روز۔
بااوصاف شخصہیہمیشہ اوصاف یا د رکھتا اور سنبھالتا و بساتا ہے ۔

ਨਾਨਕਗੁਰਮਤਿਮਿਲੀਐਮੀਤ॥੧੭॥
naanak gurmat milee-ai meet. ||17||
O’ Nanak, one realizes God, the true friend, only by following the Guru’s teachings. ||17||
ਹੇਨਾਨਕ! ਸਤਿਗੁਰੂਦੀਸਿੱਖਿਆਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲਹੀਮਿਤ੍ਰ-ਪ੍ਰਭੂਨੂੰਮਿਲਸਕੀਦਾਹੈ॥੧੭॥
نانکگُرمتِمِلیِئےَمیِت॥੧੭॥
گرمت ۔ سبق مرشد۔ میلئے میت۔ اے دوست دیدا ر و وصل نصیب ہوتا ہے ۔
اے نانک ۔ سبق مرشدسے دوست خدا کاوصل و دیدار ہو سکتا ہے ۔

ਕਾਮੁਕ੍ਰੋਧੁਕਾਇਆਕਉਗਾਲੈ॥
kaam kroDh kaa-i-aa ka-o gaalai.
The lust (obsession for sex) and anger weaken the body,
ਕਾਮਅਤੇਕ੍ਰੋਧ (ਮਨੁੱਖਦੇ) ਸਰੀਰਨੂੰਨਿਰਬਲਕਰਦੇਂਦਾਹੈ,
کامُک٘رودھُکائِیاکءُگالےَ॥
شہوت۔ کام ۔ کرؤدھ ۔ غصہ ۔ کائیا۔ جسم۔ گائے ۔ کمزور کرتا ہے ۔
ایسے ہی شہوت اور غصہ انسانی جسم کو کمزور بناتا ہے ۔

ਜਿਉਕੰਚਨਸੋਹਾਗਾਢਾਲੈ॥
ji-o kanchan sohaagaa dhaalai.
just as Suhaga (borax powder) softens the gold,
ਜਿਵੇਂਸੋਹਾਗਾ (ਕੁਠਾਲੀਵਿਚਪਾਏ) ਸੋਨੇਨੂੰਨਰਮਕਰਦੇਂਦਾਹੈ।
جِءُکنّچنسوہاگاڈھالےَ॥
کنچن ۔ سونا۔ سوہاگاڈھاے ۔ نرم بنا دیتا ہے ۔
جیسے سوہاگا سونے کو کھٹئی میں ڈالنے پر نرم بنا دیتا ہے

ਕਸਿਕਸਵਟੀਸਹੈਸੁਤਾਉ॥
kas kasvatee sahai so taa-o.
That soft gold first bears the heat of the furnace and then it is rubbed on the touchstone to test it purity:
ਉਹਢਲਿਆਹੋਇਆਸੋਨਾਕੁਠਾਲੀਵਿਚਸੇਕਸਹਿੰਦਾਹੈ, ਅਤੇਫਿਰਕਸਵੱਟੀਤੇਘਸਾਕੇਪਰਖਿਆਜਾਂਦਾਹੈ)
کسِکسۄٹیِسہےَسُتاءُ॥
کس کسوٹی ۔ کسوٹی پر گھسانا۔ سہے ۔ برداشت ۔ تاؤ ۔ گرمی ۔
تب کسوٹی پر جب گھسائای جاتا ہے اور تاؤ آگ کی تیزی برداشت کرتا ہے

ਨਦਰਿਸਰਾਫਵੰਨੀਸਚੜਾਉ॥
nadar saraaf vannee sachrhaa-o.
When its pure color shows through, only then it is approved by the jeweler; similarly, when one goes through the rigorous process of renouncing vices through the Guru’s teachings, then he is approved in God’s presence.
ਜਿਵੇਂਸੋਹਣੇਰੰਗਵਾਲਾਉਹਖਰਾਸੋਨਾਸਰਾਫ਼ਦੀਨਜ਼ਰਵਿਚਕਬੂਲਪੈਂਦਾਹੈਤਿਵੇਂਕਾਮਕ੍ਰੋਧਨਾਲਨਿਰਬਲਹੋਇਆਜੀਵਜਦੋਂਗੁਰੂਦੇਦੱਸੇਰਾਹਦੀਘਾਲ-ਕਮਾਈਕਰਦਾਹੈਤਾਂਉਹਅਕਾਲਪੁਰਖਦੀਨਜ਼ਰਵਿਚਕਬੂਲਹੁੰਦਾਹੈ)
ندرِسراپھۄنّنیِسچڑاءُ॥
ندر صراف۔ صراف کی نظر میں ۔ صراف۔ سونے چاندی کا سوداگر ۔ وتی۔ ونگی ۔ رنگ۔ سچڑاؤ۔ حقیقی سچی ۔ اصلی حالت میں ۔
تب صرافکی نظر میں ٹھیک اور قابل قبول ہوتا ہے ۔

ਜਗਤੁਪਸੂਅਹੰਕਾਲੁਕਸਾਈ॥
jagat pasoo ahaN kaal kasaa-ee.
The world’s people are behaving like animals and their ego is like a butcher, the cause of their spiritual deterioration and cause of their sufferings.
ਜਗਤ (ਸੁਆਰਥਵਿਚ) ਪਸ਼ੂਬਣਿਆਪਿਆਹੈ, ਹਉਮੈ-ਮੌਤਇਸਦੇਆਤਮਕਜੀਵਨਦਾਸੱਤਿਆਨਾਸਕਰਦੀਹੈ।
جگتُپسوُاہنّکالُکسائیِ॥
جگت ۔د نیا ۔ عالم ۔ پسو۔ حیوان بے سمجھ ۔ اہا ۔ کال ۔ خودی تکبر اور موت۔ کسائی ۔ قساب
عالم ایک حیوان کی مانند ہو رہاہ ے ۔ خودی اور موت اس کے لئے قصاب بنے ہوئے ہیں ۔

ਕਰਿਕਰਤੈਕਰਣੀਕਰਿਪਾਈ॥
kar kartai karnee kar paa-ee.
After creating the world, God also established the system of deeds and their consequences.
ਕਰਤਾਰਨੇਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀਰਚਕੇਇਹਮਰਯਾਦਾਹੀਬਣਾਦਿੱਤੀਹੈਕਿਜਿਹੋਜਿਹੀਕਰਤੂਤਕੋਈਜੀਵਕਰਦਾਹੈਉਹੋਜਿਹਾਉਸਨੂੰਫਲਮਿਲਦਾਹੈ।
کرِکرتےَکرنھیِکرِپائیِ॥
کر ۔ ہاتھ ۔ کرتے۔ کرنے والا۔ کار ساز۔ کرنی ۔ اعملا۔ کر پائی ۔ کے ذمے لگائی ۔ ذمے داری ۔ فرض عائد کیا ہے
کار ساز کرتار نے ایک اصول بنا دیا ہے کہ جیسی کار یا اعمال کوئی کرات ہے ویسا ہی نتیجہ یا پھل پاتا ہے ۔

ਜਿਨਿਕੀਤੀਤਿਨਿਕੀਮਤਿਪਾਈ॥
jin keetee tin keemat paa-ee.
God who created the world and this system, knows its worth. ਜਿਸਕਰਤਾਰਨੇਇਹਮਰਯਾਦਾਬਣਾਈਹੈਇਸਦੀਕਦਰਉਹਆਪਹੀਜਾਣਦਾਹੈ।
جِنِکیِتیِتِنِکیِمتِپائیِ॥
ج۔ جن کسی جو اعمال کرتا ہے ۔ تن قسمت پائی ۔ وہ اُسکا نتیجہ پھل پاتا ہے ۔ قسمت ۔ قدر و منزلت ۔
مگر جس کا رساز کرتار ے وہی اس کے قدرو منزلت کو سمجھتا ہے ۔

ਹੋਰਕਿਆਕਹੀਐਕਿਛੁਕਹਣੁਨਜਾਈ॥੧੮॥
hor ki-aa kahee-ai kichh kahan na jaa-ee. ||18||
What else can be said? There is nothing at all to say about this system. ||18||
ਹੋਰਕੀਕਹੀਐ ,ਇਸਮਰਯਾਦਾਬਾਰੇਹੋਰਕੁਝਆਖਿਆਨਹੀਂਜਾਸਕਦਾ? ॥੧੮॥,
ہورکِیاکہیِئےَکِچھُکہنھُنجائیِ॥੧੮॥
کچھ کہننہ جاتی۔ کوئی غلط فہمی نہیں ہو سکتی ۔
یہ اصول طے کیا ہے اس کے متعلق کوئی نکتہ چینی نہیں ہو سکتی ۔

ਖੋਜਤਖੋਜਤਅੰਮ੍ਰਿਤੁਪੀਆ॥
khojatkhojat amrit pee-aa.
After repeatedly searching within, one who drinks the ambrosial nectar of Naam,
ਜੋਮਨੁੱਖਮੁੜਮੁੜ (ਆਪਣਾਆਪ) ਖੋਜਕੇਆਤਮਕਜੀਵਨਦੇਣਵਾਲਾਨਾਮ-ਜਲਪੀਂਦਾਹੈ,
کھوجتکھوجتانّم٘رِتُپیِیا॥
کھما۔ برداشت ۔ کھوجتکھوجت ۔ تلاش کرتے کرتے ۔ انمرت۔ آبحیات۔ ایسا پانیجس سے زندگیصدیوی طور پر روحانی واخلاقی طور پر درست ہو جاتی ہے ۔
جو شخص ڈوہنڈ ڈہونڈ کر جستجو سے آبحیات پیتا ہے

ਖਿਮਾਗਹੀਮਨੁਸਤਗੁਰਿਦੀਆ॥
khimaa gahee man satgur dee-aa.
he adopts an attitude of forgiveness and surrenders his mind to the true Guru. ਉਹਦੂਜਿਆਂਦੀਵਧੀਕੀਸਹਾਰਨਦਾਸੁਭਾਉਪਕਾਲੈਂਦਾਹੈ, ਤੇ, ਆਪਣਾਮਨਆਪਣੇਸਤਿਗੁਰੂਨੂੰਸਮਰਪਨਕਰਦੇਂਦਾਹੈ।
کھِماگہیِمنُستگُرِدیِیا॥
من ستگر دیا ۔ اپنے دل کو مرشد کےس بق کا گرویدہ بنا ئیا ۔
اپنے آپ کو پہچان یعنی طرز زندگی روحانی و اخلاقی بناتا ہے وہ ہے اور مرید مرشد ہوجاتا ہے

ਖਰਾਖਰਾਆਖੈਸਭੁਕੋਇ॥
kharaa kharaa aakhai sabh ko-ay.
Everyone praises his righteousness.
ਹਰੇਕਜੀਵਉਸਦੇਖਰੇ (ਸੁੱਚੇ) ਜੀਵਨਦੀਸਲਾਘਾਕਰਦਾਹੈ,
کھراکھراآکھےَسبھُکوءِ॥
گھرا کھرا۔ اچھا اچھا۔ سبھ کوئے ۔ سارے ۔
ہر انسان اس کے سچے اخلاق کی تعریف کرتا ہے ۔

ਖਰਾਰਤਨੁਜੁਗਚਾਰੇਹੋਇ॥
kharaa ratan jug chaaray ho-ay.
and forever he becomes valuable and meritorious like a jewel.
ਉਹਸਦਾਲਈਸੁੱਚਾਸ੍ਰੇਸ਼ਟਬਣਜਾਂਦਾਹੈ।
کھرارتنُجُگچارےہوءِ॥
وہ ہمیشہ کے لئے خوش اخلاق ہو جاتا ہے ۔

ਖਾਤਪੀਅੰਤਮੂਏਨਹੀਜਾਨਿਆ॥
khaat pee-ant moo-ay nahee jaani-aa.
Those who keep enjoying worldly pleasures only, they spiritually deteriorate and never understand the worth of the ambrosial nectar of Naam. ਪਰਜੋਜੀਵਦੁਨੀਆਦੇਭੋਗਭੋਗਦੇਰਹਿੰਦੇਹਨਉਹਆਤਮਕਜੀਵਨਵਲੋਂਮਰਜਾਂਦੇਹਨ, ਉਹਨਾਂਨੂੰ (ਨਾਮ-ਅੰਮ੍ਰਿਤਦੀ) ਸੂਝਨਹੀਂਪੈਂਦੀ।
کھاتپیِئنّتموُۓنہیِجانِیا॥
کھاتپیئت ۔ دنیاوی لطف لیتے ہوئے ۔
جو کھانے پینشے میں مشغول رہتے ہیں۔ و ہ روحانی واخلاقی موت مر جاتے ہیں۔

ਖਿਨਮਹਿਮੂਏਜਾਸਬਦੁਪਛਾਨਿਆ॥
khin meh moo-ay jaa sabad pachhaani-aa.
But, when the same people understand and follow the Guru’s word, they renounce their ego in an instant.
(ਉਹੀਬੰਦੇ) ਜਦਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਨਾਲਡੂੰਘੀਸਾਂਝਪਾਂਦੇਹਨ, ਤਾਂਉਹਇਕਪਲਕਵਿਚਹੀਆਪਾ- ਭਾਵਮਾਰਮੁਕਾਂਦੇਹਨ।
کھِنمہِموُۓجاسبدُپچھانِیا॥
موئے ۔ مراد اخلاقی و روحانی موت ہوگئی ۔ نہیں جانیا نہیں۔ سمجھے ۔ کھن میہہ۔ پل ہی میں ۔س بد پچھانیا۔ کلام کو سمجھا۔
مگر جب سبق و واعظ کی پہچان اور سمجھ آجاتی ہے ۔ تو خودی مٹا دیتے ہیں

ਅਸਥਿਰੁਚੀਤੁਮਰਨਿਮਨੁਮਾਨਿਆ॥
asthir cheet maran man maani-aa.
Their mind becomes stable against the vices and feels delighted about the death of their self-conceit;
ਉਹਨਾਂਦਾਮਨਵਿਕਾਰਾਂਵਲੋਂਅਡੋਲਹੋਜਾਂਦਾਹੈ, ਤੇਆਪਾ-ਭਾਵਵਲੋਂਮਰਨਵਿਚਖ਼ੁਸ਼ਹੁੰਦਾਹੈ;
استھِرُچیِتُمرنِمنُمانِیا॥
استھر چیت۔ مستقل مزاج۔ مرن من مانیا۔ خودی مٹانا دل نے چاہیا۔
وہ مستقل مزاج ہوجاتے ہیںا ور خود مٹانے میںخوشی محسوس کرتے ہیں ۔

ਗੁਰਕਿਰਪਾਤੇਨਾਮੁਪਛਾਨਿਆ॥੧੯॥
gur kirpaa tay naam pachhaani-aa. ||19||
and by the Guru’s Grace, they have realized God’s Name. ||19||
ਸਤਿਗੁਰੂਦੀਮੇਹਰਨਾਲਪਰਮਾਤਮਾਦੇਨਾਮਨਾਲਉਹਨਾਂਦੀਡੂੰਘੀਸਾਂਝਪੈਗਈ॥੧੯॥
گُرکِرپاتےنامُپچھانِیا॥੧੯॥
نام پچھانیا۔ سچ اور صدیویس چ کی پہچان کی ۔
رحمت مرشد سےسچ و حقیقت الہٰی نام کی پہچان کر لیتے ہیں۔

ਗਗਨਗੰਭੀਰੁਗਗਨੰਤਰਿਵਾਸੁ॥
gagan gambheer gagnantar vaas.
One whose mind remains focused on the all pervading supreme God becomes profound like Him.
ਜਿਸਮਨੁੱਖਦਾਮਨਉਸਸਰਬਵਿਆਪਕਗੋਪਾਲਵਿਚਟਿਕਦਾਹੈ, ਉਹਪ੍ਰਭੂਵਰਗਾਗੰਭੀਰਹੋਜਾਂਦਾਹੈ
گگنگنّبھیِرُگگننّترِۄاسُ॥
گگن ۔ آسمان ۔ گنبھیر ۔ سنجیدہ ۔ مستقل مزاج ۔ گگننتر ۔ اُس خدا میں جو ہر جائی ہے ۔ واس ۔ ٹھکانہ ۔
جو انسان خدا میں ایمان لاتا ہے اور تعینآسمان جتنا

ਗੁਣਗਾਵੈਸੁਖਸਹਜਿਨਿਵਾਸੁ॥
gun gaavai sukh sahj nivaas.
he sings God’s praises and dwells in a state of celestial peace and poise.
ਉਸਦੇਗੁਣਗਾਂਦਾਹੈ, ਉਹਸ਼ਾਂਤੀਅਤੇਅਡੋਲਤਾਵਿਚਟਿਕਜਾਂਦਾਹੈ।
گُنھگاۄےَسُکھسہجِنِۄاسُ॥
گن گاوے ۔ حمدوثناہ ۔ سہج نواس۔ روحانی وذہنی سکون ۔ نواس۔ بسنا۔
سجنجیدہ اور زہن نشین ہونے اور حمدوثناہ کرنےس ے آرام و زہنی و روحانی سکون ملتا ہے

ਗਇਆਨਆਵੈਆਇਨਜਾਇ॥ਗੁਰਪਰਸਾਦਿਰਹੈਲਿਵਲਾਇ॥
ga-i-aa na aavai aa-ay na jaa-ay. gur parsaad rahai liv laa-ay.
By Guru’s grace he remains focussed on the all pervading God, and does not fall in the cycle of birth and death.
ਸਤਿਗੁਰੂਦੀਕਿਰਪਾਨਾਲਉਹਸਰਬ-ਵਿਆਪਕਗੋਪਾਲਵਿਚਸੁਰਤਜੋੜੀਰੱਖਦਾਹੈਅਤੇਉਹਜਨਮਮਰਨਦੇਗੇੜਵਿਚਨਹੀਂਪੈਂਦਾ,
گئِیانآۄےَآءِنجاءِ॥ گُرپرسادِرہےَلِۄلاءِ॥
گیا نہ آوے آئے نہ جائے ۔ موت و پیدائش آواگون ۔ تناسک۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد ۔ لو ۔ محبت ۔ محو و مجذوب
تناسخ میں نہیں پڑنا پڑتا ۔ رحمت مرشد خڈا سے محبت میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔

ਗਗਨੁਅਗੰਮੁਅਨਾਥੁਅਜੋਨੀ॥
gagan agamm anaath ajonee.
The all pervading God is incomprehensible, independent (has no master) and is free from birth and death,
ਸਰਬ-ਵਿਆਪਕਗੋਪਾਲਅਪਹੁੰਚਹੈ, ਉਸਦੇਸਿਰਉਤੇਕਿਸੇਦਾਕੁੰਡਾਨਹੀਂਹੈ, ਉਹਜੰਮਣ-ਮਰਨਤੋਂਰਹਿਤਹੈ।
گگنُاگنّمُاناتھُاجونیِ॥
گگن اگم۔ جو آسمان کی مانند ہر جائی اور انسانی سمجھ عقل و ہوش سے بعید ہے ۔ اناتھ ۔ جسکا کوئی مالک نہیں۔
آسمان جتنا بلند انسانی عقل وہوش سے بالا و بعید جو کسی کی ملکیت نہیں جنم و پیداش سے

ਅਸਥਿਰੁਚੀਤੁਸਮਾਧਿਸਗੋਨੀ॥
asthir cheet samaaDh sagonee.
and mind focused on Him becomes virtuous and stable against vices.
ਉਸਵਿਚਜੋੜੀਹੋਈਸੁਰਤਮਨੁੱਖਦੇਅੰਦਰਗੁਣਪੈਦਾਕਰਦੀਹੈ, ਤੇਮਨਨੂੰਮਾਇਆਵਿਚਡੋਲਣਤੋਂਬਚਾਲੈਂਦੀਹੈ।
استھِرُچیِتُسمادھِسگونیِ॥
استھر چیت ۔ سنجیدہ مستقل مزاج۔ سمادھ سگوتی ۔ با اوصاف دھاین لگانا۔
مبرا میں یکسوئی دھیان سنجیدگی اوصاف ہے

ਹਰਿਨਾਮੁਚੇਤਿਫਿਰਿਪਵਹਿਨਜੂਨੀ॥
har naam chayt fir paveh na joonee.
O’ Pandit, lovingly remember God’s name and you will not fall into the cycle of birth and death again.
(ਹੇਪਾਂਡੇ!) ਤੂੰ (ਭੀ) ਉਸਹਰਿ-ਗੋਪਾਲਦਾਨਾਮਸਿਮਰ, (ਸਿਮਰਨਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲ) ਫਿਰਜਨਮ-ਮਰਨਵਿਚਨਹੀਂਪਏਂਗਾ।
ہرِنامُچیتِپھِرِپۄہِنجوُنیِ॥
جونی ۔ اواگون۔
خدا کو یاد کرتا کہ پھر پیدا نہ ہونا پڑے ۔

ਗੁਰਮਤਿਸਾਰੁਹੋਰਨਾਮਬਿਹੂਨੀ॥੨੦॥
gurmat saar hor naam bihoonee. ||20||
To follow the Guru’s teachings is the most sublime way of living, all otherteachings keep one bereft of God’s Name. ||20||
ਸਤਿਗੁਰੂਦੀਮੱਤਹੀ (ਜੀਵਨਲਈ) ਸ੍ਰੇਸ਼ਟਰਸਤਾਹੈ, ਹੋਰਮੱਤਉਸਦੇਨਾਮਤੋਂਵਾਂਜਿਆਰੱਖਦੀਹੈ॥੨੦॥
گُرمتِسارُہورنامبِہوُنیِ॥੨੦॥
گرمت۔ سبق مرشد۔ سار ۔ حقیقت۔ اسل۔ نام و ہونی ۔ حقیقت سے خالی ۔
سبق و واعط مرشد ہی حقیق و اصلی سمجھ ہے ۔ دوسرے الہٰی نامس چ و حقیقت سے خالی ہیں۔

ਘਰਦਰਫਿਰਿਥਾਕੀਬਹੁਤੇਰੇ॥
ghar dar fir thaakee bahutayray.
O’ pandit, going through a myriad of incarnations, this soul is exhausted,
ਹੇਪਾਂਡੇ! ਇਹਜਿੰਦਕਈਜੂਨਾਂਵਿਚਭੌਂਭੌਂਕੇਖਪਗਈਹੈ,
گھردرپھِرِتھاکیِبہُتیرے॥
تھا کی ۔ ماند ہوئی ۔ مراد بہت سی زندگیاں پاکر ماند ہوگئی ۔
جب بیشمار زندگیاں پپاکر ماند پڑ گیا ی ااتنے در دروازے پر گیا

ਜਾਤਿਅਸੰਖਅੰਤਨਹੀਮੇਰੇ॥
jaat asaNkh ant nahee mayray.
I cannot count the innumerable lives it has gone through.
ਇਤਨੀਆਂਅਣ-ਗਿਣਤਜਾਤੀਆਂਵਿਚੋਂਲੰਘਦੀਹੈਜਿਨ੍ਹਾਂਦਾਮੈਂਅੰਤਨਹੀਂਪਾਸਕਦਾ।
جاتِاسنّکھانّتنہیِمیرے॥
اسنکھ ۔ بیشمار۔ انت ۔ آخر مت ۔
میرے ان گنت جنموں کی کوئی انتہا نہیں

ਕੇਤੇਮਾਤਪਿਤਾਸੁਤਧੀਆ॥
kaytay maat pitaa sutDhee-aa.
During this process countless have become this soul’s mothers, fathers, sons, and daughters. (ਇਹਨਾਂਬੇਅੰਤਜੂਨਾਂਵਿਚਭਟਕਦੀਜਿੰਦਦੇ) ਕਈਮਾਂਪਿਉਪੁੱਤਰਧੀਆਂਬਣਦੇਹਨ,
کیتےماتپِتاسُتدھیِیا॥
بیٹے ۔ دھیا ۔ بیٹیاں۔ فن ۔ بار بار۔ کاپے ۔
کتنے ہی میرے ماں باپ اور میرے بیٹے بیٹیاں بنی

ਕੇਤੇਗੁਰਚੇਲੇਫੁਨਿਹੂਆ॥
kaytay gur chaylay fun hoo-aa.
Countless, became its Gurus and then disciples.
ਇਸਦੇਕਈਗੁਰੂਬਣੇ, ਤੇਕਈਚੇਲੇਬਣੇ।
کیتےگُرچیلےپھُنِہوُیا॥
گر ۔ انجان مرشد۔
کتنے مرید اور مرشد ہوئے ہیں۔

ਕਾਚੇਗੁਰਤੇਮੁਕਤਿਨਹੂਆ॥
kaachay gur tay mukat na hoo-aa.
But liberation is not attained by following the teachings of the imperfect Guru. ਇਹਨਾਂਜੂਨਾਂਤੋਂਤਦਤਕਖ਼ਲਾਸੀਨਹੀਂਹੁੰਦੀਜਦਤਕਕਿਸੇਕੱਚੇਗੁਰੂਦੀਸਰਨਲਈਹੋਈਹੈ।
کاچےگُرتےمُکتِنہوُیا॥
مکت ۔ نجات۔ کیتی نار۔ کتنی ہی بیویاں۔
انجان خاممرشد نجات نہیں دلا سکتا

ਕੇਤੀਨਾਰਿਵਰੁਏਕੁਸਮਾਲਿ॥
kaytee naar var ayk samaal.
There are so many soul-brides like these, but the Husband-God takes care of all.
(ਹੇਪਾਂਡੇ!ਅਜੇਹੀਆਂਕਈਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਆਂਹਨ, ਖਸਮ-ਪ੍ਰਭੂਸਭਦੀਸੰਭਾਲਕਰਦਾਹੈ।
کیتیِنارِۄرُایکُسمالِ॥
در۔ خاوند۔سمال۔سنبھال ۔
مگر خاوند سب کا ایک ہے مراد سب کا مالک ہے ۔

ਗੁਰਮੁਖਿਮਰਣੁਜੀਵਣੁਪ੍ਰਭਨਾਲਿ॥
gurmukh maran jeevan parabh naal.
The soul-bride who follows the Guru’s teachings, she spiritually survives when she remembers God otherwise she spiritually deteriorates.
ਜੋਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਗੁਰੂਦੇਸਨਮੁਖਰਹਿੰਦੀਹੈ,ਪ੍ਰਭੂਦੀਯਾਦਵਿਚਜਿਉਂਦੀਹੈਅਤੇਵਿਛੋੜੇਵਿਛਮਰਣਲਗਦੀਹੈ
گُرمُکھِمرنھُجیِۄنھُپ٘ربھنالِ॥
گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ مرن جیون ۔ زندگی و موت ۔ پربھ نال۔ الہٰی رضا مندی یا رضا میں۔
۔ مرید مرشد کی زندگی اور موت کا انحصار اور اُمید خدا پر ہے ۔

ਦਹਦਿਸਢੂਢਿਘਰੈਮਹਿਪਾਇਆ॥
dah dis dhoodhgharai meh paa-i-aa.
One who has been searching for God everywhere, (by the Guru’s grace) realized Him within the heart itself
ਹੋਰਹਰਪਾਸੇਢੂੰਢਢੂੰਡਕੇ (ਗੁਰੂਦੀਕਿਰਪਾਨਾਲ) ਹਿਰਦੇ-ਘਰਵਿਚਹੀਗੋਪਾਲ-ਪ੍ਰਭੂਲੱਭਲਿਆ।
دہدِسڈھوُڈھِگھرےَمہِپائِیا॥
دہدس ۔ ہر طرفدہونڈ ۔ تلاش۔ گھر ے ماہے ۔ دلمیں۔
ہر طرف جستجو کرنے پر آکر اپنے اند دل میں پائیا

ਮੇਲੁਭਇਆਸਤਿਗੁਰੂਮਿਲਾਇਆ॥੨੧॥
mayl bha-i-aa satguroo milaa-i-aa. ||21||
O’ pandit, only that one unites with God Whom the true Guru unites. ||21||
(ਹੇਪਾਂਡੇ! ਸਿਰਫ਼ਉਸਜਿੰਦਦਾਪ੍ਰਭੂਨਾਲ) ਮਿਲਾਪਹੁੰਦਾਹੈਜਿਸਨੂੰਸਤਿਗੁਰੂਮਿਲਾਂਦਾਹੈ॥੨੧॥
میلُبھئِیاستِگُروُمِلائِیا॥੨੧॥
میل بھئیا۔ ملاپ ہوا۔
ملاپ ہوا اور سچے مرشد نے ملائیا۔

ਗੁਰਮੁਖਿਗਾਵੈਗੁਰਮੁਖਿਬੋਲੈ॥
gurmukh gaavai gurmukh bolai.
Only a follower of the Guru sings God’s praises and talks about His virtues.
ਗੁਰਮੁਖਹੀ (ਪ੍ਰਭੂਦੇਗੁਣ) ਗਾਉਂਦਾਹੈ, ਤੇ (ਪ੍ਰਭੂਦੀਸਿਫ਼ਤ) ਉਚਾਰਦਾਹੈ।
گُرمُکھِگاۄےَگُرمُکھِبولےَ॥
گورمکھ ۔ مرید مرشد۔
مرید مرشد ہی کراتا ہے حمدوثناہ

ਗੁਰਮੁਖਿਤੋਲਿਤੋੁਲਾਵੈਤੋਲੈ॥
gurmukhtol tolaavai tolai.
Only a follower of the Guru reflects on the worth of divine virtues and inspires others to do the same.
ਗੁਰਮੁਖਹੀ (ਪ੍ਰਭੂਦੇਗੁਣਾਨੂੰਆਪਣੇਮਨਵਿਚ) ਤੋਲਦਾਹੈ (ਤੇਹੋਰਨਾਂਨੂੰ) ਤੋਲਣਲਈਪ੍ਰੇਰਦਾਹੈ।
گُرمُکھِتولِتد਼لاۄےَتولےَ॥
تول تلاوے توے ۔ آزمائش ا ور پہچان کرتا اور کراتا ہے۔
مرید مرشد ہی اُس کی پہچان کرتا اور قدر وقیمت پاتا

ਗੁਰਮੁਖਿਆਵੈਜਾਇਨਿਸੰਗੁ॥
gurmukh aavai jaa-ay nisang.
A follower of the Guru is free of all bonds, he comes in and goes out of this world on his own accord without hesitation.
ਗੁਰਮੁਖਹੀ (ਜਗਤਵਿਚ) ਬੰਧਨ-ਰਹਿਤਆਉਂਦਾਹੈਤੇਬੰਧਨ-ਰਹਿਤਹੀਇਥੋਂਜਾਂਦਾਹੈ (ਭਾਵ, ਨਾਹਹੀਕਿਸੇਕਰਮਾਂਦੇਫਲਭੋਗਣਆਉਂਦਾਹੈਤੇਨਾਹਹੀਇਥੋਂਕੋਈਮੰਦਕਰਮਾਂਦੇਬੰਧਨਸਹੇੜਕੇਲੈਜਾਂਦਾਹੈ),
گُرمُکھِآۄےَجاءِنِسنّگُ॥
نسنگ ۔ بلا جھجک ۔
۔ مرید مرشد پا بندیوں سے آزاد اس دنیا میں آتا اور چلا جاتا ہے ۔

ਪਰਹਰਿਮੈਲੁਜਲਾਇਕਲੰਕੁ॥
parhar mail jalaa-ay kalank.
Because he has already washed off the dirt of sins from his mind and has already burnt away all the vices
(ਕਿਉਂਕਿਗੁਰਮੁਖਿਮਨੁੱਖਮਨਦੀ) ਮੈਲਨੂੰਦੂਰਕਰਕੇਵਿਕਾਰਨੂੰ (ਆਪਣੇਅੰਦਰੋਂ) ਮੁਕਾਚੁਕਾਹੁੰਦਾਹੈ।
پرہرِمیَلُجلاءِکلنّکُ॥
پرہر ۔ مٹا کر۔ میل ۔ ناپاکیزگی ۔ کلنک ۔ دبھہ ۔ داغ۔
وہ نا پاکیزگی دور کرکے زندگی کے داغ مٹا چکا ہوتا ہے ۔ ا

ਗੁਰਮੁਖਿਨਾਦਬੇਦਬੀਚਾਰੁ॥
gurmukh naad bayd beechaar.
For a Guru’s follower, reflection on divine virtues is like the divine melody and like the study of the Vedas.
(ਪ੍ਰਭੂਦੇਗੁਣਾਂਦੀ) ਵਿਚਾਰਗੁਰਮੁਖਵਾਸਤੇਰਾਗਤੇਵੇਦਹੈ,
گُرمُکھِنادبیدبیِچارُ॥
ناد وید و چار۔ مذہبی کتابوں اور سنگیت کو سمجھنے والاہے ۔ مجن۔ اشنان ۔ غسل۔
الہٰی اوصاف کی سچ سمجھ اور خیال ہی اُس کے لئے سنگیت اور مذہبی کتاب ہے ۔

ਗੁਰਮੁਖਿਮਜਨੁਚਜੁਅਚਾਰੁ॥
gurmukh majan chaj achaar.
For the Guru’s follower, maintaining a pious conduct is like taking a holy bath.
ਉੱਚਾਆਚਰਣ (ਬਨਾਣਾ) ਗੁਰਮੁਖਦਾ (ਤੀਰਥ-) ਇਸ਼ਨਾਨਹੈ।
گُرمُکھِمجنُچجُاچارُ॥
چج آجار ۔ بلند اخلاق۔ چال چلن ۔
بلند اخلاق رید مرشد کے لئےز یارت ہے ۔

ਗੁਰਮੁਖਿਸਬਦੁਅੰਮ੍ਰਿਤੁਹੈਸਾਰੁ॥
gurmukh sabad amrit hai saar.
For a Guru’s follower, his divine word is the sublime ambrosialnectar.
(ਸਤਿਗੁਰੂਦਾ) ਸ਼ਬਦਗੁਰਮੁਖਲਈਸ੍ਰੇਸ਼ਟਅੰਮ੍ਰਿਤਹੈ।
گُرمُکھِسبدُانّم٘رِتُہےَسارُ॥
کور مکھ سبد۔ کلام مرشدانمرت ہے سار ۔مقدس۔ آبحیات ۔
کلامہی مرشد کے لئے خاص آب حیات ہے

ਨਾਨਕਗੁਰਮੁਖਿਪਾਵੈਪਾਰੁ॥੨੨॥
naanak gurmukh paavai paar. ||22||
O’ Nanak, the Guru’s follower crosses over the worldly ocean of vices. ||22||
ਹੇਨਾਨਕ! ਗੁਰੂਦੇਸਨਮੁਖਰਹਿਣਵਾਲਾਮਨੁੱਖ (ਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰਦਾ) ਪਾਰਲਾਬੰਨਾਲੱਭਲੈਂਦਾਹੈ (ਭਾਵ, ਵਿਕਾਰਾਂਦੀਆਂਲਹਿਰਾਂਵਿਚੋਂਬਚਨਿਕਲਦਾਹੈ) ॥੨੨॥
نانکگُرمُکھِپاۄےَپارُ॥੨੨॥
گورمکھ پاوے پار ۔ مرید مرشد کامیابی دلاتا ہے ۔
اے نانک مرید مرشد اپنی زندگی کامیاب بناتا ہے ۔

ਚੰਚਲੁਚੀਤੁਨਰਹਈਠਾਇ॥
chanchal cheet na rah-ee thaa-ay.
O’ pandit, the fickle mind does not remain stable (without enshrining God’s Name in the heart).
(ਹੇਪਾਂਡੇ! ਗੋਪਾਲਦਾਨਾਮਮਨਦੀਪੱਟੀਉਤੇਲਿਖਣਤੋਂਬਿਨਾਮਨੁੱਖਦਾ) ਚੰਚਲਮਨਟਿਕਕੇਨਹੀਂਬੈਠਦਾ,
چنّچلُچیِتُنرہئیِٹھاءِ॥
چنچل ۔ شرارتی ۔ چیت ۔ من ۔ ٹھائے ۔ ٹھکانے ۔پر سکون ۔
شرارتی دماغ سکون نہیں پاتا

ਚੋਰੀਮਿਰਗੁਅੰਗੂਰੀਖਾਇ॥
choree mirag angooree khaa-ay.
Like a deer secretly nibbles at the green sprouts, the fickle mind keeps indulging in sinful deeds.
ਇਹ (ਮਨ-) ਹਰਣਲੁਕਲੁਕਕੇਨਵੇਂਨਵੇਂਭੋਗਭੋਗਦਾਹੈ।
چوریِمِرگُانّگوُریِکھاءِ॥
چوری مر گ ۔ چھپ کرنفس ۔ انگوری ۔ نئی نئی نعمتیں ۔
اور نفس پوشیدہ طور پر نئے نئے لطف اور مزوں میں مشغول رہتا ہے ۔

ਚਰਨਕਮਲਉਰਧਾਰੇਚੀਤ॥
charan kamal ur Dhaaray cheet.
One who enshrines God’s immaculate Name in his heart and mind,
ਜੋਮਨੁੱਖ (ਪ੍ਰਭੂਦੇ) ਕਉਲਫੁੱਲਾਂ (ਵਰਗੇਸੋਹਣੇ) ਚਰਨ (ਆਪਣੇ) ਚਿੱਤਵਿਚਵਸਾਂਦਾਹੈ,
چرنکملاُردھارےچیِت॥
چنر کمل۔ پائے پاک ۔ دھارے چیت ۔ دلمیں بسائے ۔
نیک اور پاک خیال دل میں بسانے سے

ਚਿਰੁਜੀਵਨੁਚੇਤਨੁਨਿਤਨੀਤ॥
chir jeevan chaytan nit neet.
He becomes immortal (free of births and deaths) and spiritually aware forever. ਉਹਸਦਾਲਈਅਮਰਤੇਸੁਚੇਤਹੋਜਾਂਦਾਹੈ (ਭਾਵ, ਨਾਹਵਿਕਾਰਾਂਦੀਫਾਹੀਵਿਚਫਸਦਾਹੈਤੇਨਾਹਹੀਜਨਮਾਂਦੇਗੇੜਵਿਚਪੈਂਦਾਹੈ)।
چِرُجیِۄنُچیتنُنِتنیِت॥
چر حیون۔ لمبی عمر۔ چیتن ۔ ہوشیاری ۔ بیداری ۔
لبمی عمر اور بیداریہوجاتی ہے ۔

ਚਿੰਤਤਹੀਦੀਸੈਸਭੁਕੋਇ॥
chintat hee deesai sabh ko-ay.
Everybody seems to be worried,
(ਜਿਧਰਤੱਕੋਚੰਚਲਤਾਦੇਕਾਰਨ) ਹਰੇਕਜੀਵਚਿੰਤਾਤੁਰਦਿੱਸਦਾਹੈ।
چِنّتتہیِدیِسےَسبھُکوءِ॥
چنتت ۔ فکر مندی ۔
جدھر نظر ڈالو ہر ادمی فکر مندر دکھائی دیتا ہے ۔

ਚੇਤਹਿਏਕੁਤਹੀਸੁਖੁਹੋਇ॥
cheeteh ayk tahee sukh ho-ay.
but those who lovingly remember God, dwell in celestial peace.
ਪਰਜੋਮਨੁੱਖਪਰਮਾਤਮਾਨੂੰਸਿਮਰਦੇਹਨ, ਉਹਸੁਖਪਾਉਂਦੇਹਨ।
چیتہِایکُتہیِسُکھُہوءِ॥
چیتہہ۔ یاد کرئے ۔ تہی ۔ تبھی ۔
مگر جوواحد خدا کی یاد وریاض کرتا ہے ۔ وہی آرام و سکون پاتا ہے ۔

ਚਿਤਿਵਸੈਰਾਚੈਹਰਿਨਾਇ॥
chit vasai raachai har naa-ay.
One who remains absorbed in God’s Name, God manifests in his mind,
(ਜਿਸਜੀਵਦੇ) ਚਿੱਤਵਿਚਪ੍ਰਭੂਆਵੱਸਦਾਹੈਜੋਮਨੁੱਖਪ੍ਰਭੂਦੇਨਾਮਵਿਚਲੀਨਹੁੰਦਾਹੈ,
چِتِۄسےَراچےَہرِناءِ॥
چت وسے ۔د لمیں بسے ۔ راجے ہر نائے ۔ الہٰی نا میں محو ومجذوبہو ۔
جس کے دل میں خڈا بس جائے وہ الہٰی نام میں محو ومجذوب

ਮੁਕਤਿਭਇਆਪਤਿਸਿਉਘਰਿਜਾਇ॥੨੩॥
mukatbha-i-aa pat si-o ghar jaa-ay. ||23||
he gets liberated from worldly bonds and goes to his true home (unites with God) with honor. ||23||
ਉਹ (ਮਾਇਕਭੋਗਾਂਤੋਂ) ਖ਼ਲਾਸੀਪਾਲੈਂਦਾਹੈ (ਤੇਇਥੋਂ) ਇੱਜ਼ਤਨਾਲ (ਆਪਣੇਅਸਲੀ) ਘਰਵਿਚਜਾਂਦਾਹੈ॥੨੩॥
مُکتِبھئِیاپتِسِءُگھرِجاءِ॥੨੩॥
پت سیو ۔ با عزت۔ مکت بھئیا ۔ آزاد ہوا ۔ نجات پائی ۔ گھر جائے ۔ واصل بحق ہوا۔
ہرکر وہ نجات پاتا ہے اور واصل بحق ہوجاتا ہے ۔

ਛੀਜੈਦੇਹਖੁਲੈਇਕਗੰਢਿ॥
chheejai dayh khulai ik gandh.
O’ pundit, the body falls apart, when one knot (the system holding the breaths) is untied.
(ਹੇਪਾਂਡੇ!)ਜਦੋਂਪ੍ਰਾਣੀ (ਦੇਪ੍ਰਾਣਾਂਦੀਗੰਢਖੁਲ੍ਹਜਾਂਦੀਹੈ, ਤਾਂਸਰੀਰਨਾਸਹੋਜਾਂਦਾਹੈ l
چھیِجےَدیہکھُلےَاِکگنّڈھِ॥
چھیجے دیہہ۔ جب جسم ختم ہوتا ہے ۔ کھلے اک گنڈھ ۔ تو ایک راز افشاں ہوتا ہے ۔
جب سانس ختم ہو جاتے ہیں تو جسم کی حرکت بند ہوجاتی ہے ۔

ਛੇਆਨਿਤਦੇਖਹੁਜਗਿਹੰਢਿ॥
chhay-aa nitdaykhhu jag handh.
You may go around the world and see for yourself that every day, this phenomena of death is going on.
ਸਾਰੇਜਗਤਵਿਚਫਿਰਕੇਵੇਖਲਵੋਮੌਤ (ਦਾਇਹਕੌਤਕ) ਨਿੱਤਵਰਤਰਿਹਾਹੈ।
چھییانِتدیکھہُجگِہنّڈھِ॥
چھیانت ۔ خاتمہ ۔ مرادموت ہر روزدیکھتے ہیں۔ دیکھ جگ ہنڈ ۔ دنیا کو غور سے دیکھو ۔
موت کایہ کھیل دنیا میں دیکھنے میں اتا ہے ۔

ਧੂਪਛਾਵਜੇਸਮਕਰਿਜਾਣੈ॥
Dhoop chhaav jay sam kar jaanai.
If one deems both pain and pleasure as equal;
ਜੇਮਨੁੱਖ (ਇਸਜੀਵਨਵਿਚਵਾਪਰਦੇ) ਦੁੱਖਾਂਸੁਖਾਂਨੂੰਇਕੋਜਿਹਾਕਰਕੇਸਮਝਲਏ,
دھوُپچھاۄجےسمکرِجانھےَ॥
دہوپ چھاؤ ں ۔ غمی ۔ خوشی ۔ ؑذاب و آسائش ۔ سم ۔ برابر ۔ یکساں۔ ایک جیسا ۔
جو انسان عذاب و آسائش ایک نظرئے سے ایک سا دیکھتا ہے ۔

ਬੰਧਨਕਾਟਿਮੁਕਤਿਘਰਿਆਣੈ॥
banDhan kaat mukatghar aanai.
then cutting off the worldly bonds, one gets liberated as if he has brought in his heart the freedom from these bonds.
ਤਾਂ (ਮਾਇਆਦੇ) ਬੰਧਨਾਂਨੂੰਕੱਟਕੇ (ਮਾਇਕਭੋਗਾਂਤੋਂ) ਆਜ਼ਾਦੀਨੂੰਆਪਣੇਅੰਦਰਲੈਆਉਂਦਾਹੈ।
بنّدھنکاٹِمُکتِگھرِآنھےَ॥
بندھن ۔ غلامی ۔ مکت۔ آزادی۔ نجات۔
وہ دنیاوی نعمتوں کی غلامی سے ناجت پاکر ذہنی آذادی حاصل کر لیتا ہے

ਛਾਇਆਛੂਛੀਜਗਤੁਭੁਲਾਨਾ॥
chhaa-i-aa chhoochhee jagatbhulaanaa.
The illusion of Maya is very shallow but still the entire world is strayed by it,
ਜਗਤਇਸਥੋਥੀ (ਭਾਵ, ਜੋਸਾਥਤੋੜਨਹੀਂਨਿਬਾਹੁੰਦੀ) ਮਾਇਆ (ਦੇਪਿਆਰ) ਵਿਚਕੁਰਾਹੇਪੈਰਿਹਾਹੈ,
چھائِیاچھوُچھیِجگتُبھُلانا॥
چھائیا۔ دنیاوی دولت ۔ چھوچھی ۔ تھوتھی ۔ بیکار۔ جگت بھلانا۔ عالم گمراہ ہے ۔
علام اس کا ساتھ نہ دینے والیدولت میں گمراہ ہو رہا ہے ۔

ਲਿਖਿਆਕਿਰਤੁਧੁਰੇਪਰਵਾਨਾ॥
likhi-aa kiratDhuray parvaanaa.
But such is their preordained destiny (and they cannot escape from it).
ਜੀਵਾਂਦੇਮੱਥੇਉਤੇਇਹੀ) ਕਿਰਤ-ਰੂਪਲੇਖਸ਼ੁਰੂਤੋਂਹੀਲਿਖਿਆਪਿਆਹੈ(ਮਾਇਆਦੇਮੋਹਵਿਚਫਸੇਹੋਏਹਨ)।
لِکھِیاکِرتُدھُرےپرۄانا॥
لکھیا۔ تحریر شدہ ۔ کرت ۔ کئے ہوئے اعمال۔ دھرے ۔ا لہٰی حضور سے ۔ پروانا۔ قبول۔
آغاز زندگی سے ہی اُسکا اعمالنامہ تحریر اور منظور ہوتا ہے ۔

ਛੀਜੈਜੋਬਨੁਜਰੂਆਸਿਰਿਕਾਲੁ॥ਕਾਇਆਛੀਜੈਭਈਸਿਬਾਲੁ॥੨੪॥
chheejai joban jaroo-aa sir kaal. kaa-i-aa chheejai bha-ee sibaal. ||24||
O’ pandit, when youth is gone, old age comes and death appears hovering over one’s head, the body falls apart like algae in water. ||24||
ਹੇਪਾਂਡੇ!) ਜਵਾਨੀਖ਼ਤਮਹੋਜਾਂਦੀਹੈ, ਬੁਢੇਪਾਆਜਾਂਦਾਹੈ, ਮੌਤਸਿਰਉਤੇ (ਖੜੀਜਾਪਦੀਹੈ), ਸਰੀਰਕਮਜ਼ੋਰਹੋਜਾਂਦਾਹੈ (ਤੇਮਨੁੱਖਦੀਚਮੜੀਪਾਣੀਦੇ) ਜਾਲੇਵਾਂਗਢਿੱਲੀਹੋਜਾਂਦੀਹੈ॥੨੪॥
چھیِجےَجوبنُجروُیاسِرِکالُ॥ کائِیاچھیِجےَبھئیِسِبالُ॥੨੪॥
بھجے جوبن۔ جوانی ڈھلتی ہے ۔ جروا سر کال۔ موت اور بڑھاپا سر پر ہے ۔ بھئی سبال۔ جالے کی مانند ہوجاتی ہے ۔
جوانی ختم ہوتے ہی برھاپااور موت قریب آجاتی ہے ۔ جسم کمزور پڑ جاتا ہے اور چمڑی ڈھیلی ہوجاتی ہے ۔