Urdu-Raw-Page-754

ਹਰਿਕਾਨਾਮੁਸਤਿਕਰਿਜਾਣੈਗੁਰਕੈਭਾਇਪਿਆਰੇ॥
har kaa naam sat kar jaanai gur kai bhaa-ay pi-aaray.
One who loves the beloved Guru, understands that God’s Name is eternal. ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਪਿਆਰੇਗੁਰੂਦੇਪ੍ਰੇਮਵਿਚਟਿਕਿਆਰਹਿੰਦਾਹੈ, ਉਹਇਹਗੱਲਸਮਝਲੈਂਦਾਹੈਕਿਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਹੀਸੱਚਾਸਾਥੀਹੈ।
ہرِ کا نامُ ستِ کرِ جانھےَ گُر کےَ بھاءِ پِیارے ॥
ست سچ سمجھ ۔ گر کے بھائے ۔ رضائے مرشد
الہٰی نام سچ صدیوی سمجھے اور ساتھی سمجھے جو مرشد کی ریاض و رغبت میں ہے ۔
ਸਚੀਵਡਿਆਈਗੁਰਤੇਪਾਈਸਚੈਨਾਇਪਿਆਰੇ॥
sachee vadi-aa-ee gur tay paa-ee sachai naa-ay pi-aaray.
He learns about singing the eternal God’s praises and develops love for Him. ਉਹਮਨੁੱਖਪਰਮਾਤਮਾਦੀਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੀਸਿਫ਼ਤਿ-ਸਾਲਾਹਗੁਰੂਪਾਸੋਂਪ੍ਰਾਪਤਕਰਲੈਂਦਾਹੈ, ਉਹਸਦਾ-ਥਿਰਪ੍ਰਭੂਦੇਨਾਮਵਿਚਪਿਆਰਕਰਨਲੱਗਪੈਂਦਾਹੈ।
سچیِ ۄڈِیائیِ گُر تے پائیِ سچےَ ناءِ پِیارے ॥
۔ سچی وڈیائی ۔ سچی عطمت۔ بزرگی ۔ سچے ناے پیارے ۔ سچے نام سے پیار۔ وچارے
سچے نام کی سچی ہے عظمت جو مرشد سے ملتی ہے ۔
ਏਕੋਸਚਾਸਭਮਹਿਵਰਤੈਵਿਰਲਾਕੋਵੀਚਾਰੇ॥
ayko sachaa sabh meh vartai virlaa ko veechaaray.
However, only a rare person realizes the fact that one and only one God pervades all, ਕੋਈਵਿਰਲਾਮਨੁੱਖ (ਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਕੇ) ਇਹਵਿਚਾਰਕਰਦਾਹੈਕਿਸਾਰੀਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀਵਿਚਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲਾਪਰਮਾਤਮਾਹੀਵੱਸਦਾਹੈ।
ایکو سچا سبھ مہِ ۄرتےَ ۄِرلا کو ۄیِچارے ॥
کسی کو ہی اس بات کی سوچ اور سمجھ ہے کہ واحد خدا ہی سب کے دل میں بستا ہے ۔
ਆਪੇਮੇਲਿਲਏਤਾਬਖਸੇਸਚੀਭਗਤਿਸਵਾਰੇ॥੭॥
aapay mayl la-ay taa bakhsay sachee bhagat savaaray. ||7||
and only when God Himself unites a person with Himself, He forgives and embellishes that person with His true devotion. ||7|| (ਅਜੇਹੇਮਨੁੱਖਨੂੰ) ਜਦੋਂਪ੍ਰਭੂਆਪਹੀਆਪਣੇਚਰਨਾਂਵਿਚਜੋੜਦਾਹੈ, ਤਾਂਉਸਉਤੇਬਖ਼ਸ਼ਸ਼ਕਰਦਾਹੈ, ਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੀਆਪਣੀਭਗਤੀਦੇਕੇਉਸਦਾਜੀਵਨਸੋਹਣਾਬਣਾਦੇਂਦਾਹੈ॥੭॥
آپے میلِ لۓ تا بکھسے سچیِ بھگتِ سۄارے ॥੭॥
۔ سمجھتا ہے ۔ سچی بھگت ۔ سچا پریم
جب خود ہی انسان کو وصل وملاپ عنایت کرتا ہے تو اسے اپنا صدیوی پریم پیار عنایت کرتا ہے ۔ جس سے اسکی طرز زندگی صراط مستقیم پر آجاتی ہے (7)
ਸਭੋਸਚੁਸਚੁਸਚੁਵਰਤੈਗੁਰਮੁਖਿਕੋਈਜਾਣੈ॥
sabho sach sach sach vartai gurmukh ko-ee jaanai.
O’ my friends, only a rare Guru’s follower understands that it is the eternal God Himself who is pervading everywhere and doing everything. ਹੇਭਾਈ! ਕੋਈਵਿਰਲਾਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਕੇਸਮਝਦਾਹੈਕਿਹਰਥਾਂਸਦਾਕਾਇਮਰਹਿਣਵਾਲਾਪਰਮਾਤਮਾਹੀਕੰਮਕਰਰਿਹਾਹੈ।
سبھو سچُ سچُ سچُ ۄرتےَ گُرمُکھِ کوئیِ جانھےَ ॥
سبھو سچ سچ سچ درتے ۔ ہر جگہ خدا بس رہا ہے اور سب میں بس رہا ہے ۔
پیارے مرشد کی ریآض و رغبت سے پتہ چلتا ہے ۔ کہ الہٰی نام سچ اور صدیوی ہے ۔ کسی کو ہی مرید مرشد ہوکر سمجھ آتی ہے
ਜੰਮਣਮਰਣਾਹੁਕਮੋਵਰਤੈਗੁਰਮੁਖਿਆਪੁਪਛਾਣੈ॥
jaman marnaa hukmo vartai gurmukh aap pachhaanai.
The Guru’s follower keeps reflecting on his own self and understands that birth and death happen as per His command only. ਜਗਤਵਿਚਜੰਮਣਾਮਰਨਾਭੀਉਸੇਦੇਹੁਕਮਵਿਚਚੱਲਰਿਹਾਹੈ।ਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਣਵਾਲਾਉਹਮਨੁੱਖਆਪਣੇਆਤਮਕਜੀਵਨਨੂੰਪੜਤਾਲਦਾਰਹਿੰਦਾਹੈ।
جنّمنھ مرنھا ہُکمو ۄرتےَ گُرمُکھِ آپُ پچھانھےَ ॥
جن مرنا حکمودرتے ۔ موت و پیدائش الہٰی حکم میں ہے ۔ گورمکھ آپ پچھانے ۔ مرید مرشد اپنے آپ کو سمجھت اہے ۔
انسان کی موت و پیدائش بھی اس کے زیر فرمان ہے مگر مرید مرشد ہی اپنی زندگی کی پہچان کرتا ہے ۔
ਨਾਮੁਧਿਆਏਤਾਸਤਿਗੁਰੁਭਾਏਜੋਇਛੈਸੋਫਲੁਪਾਏ॥naam Dhi-aa-ay taa satgur bhaa-ay jo ichhai so fal paa-ay.
When he lovingly remembers God, he becomes pleasing to the true Guru and receives whatever reward he desires. ਜਦੋਂਉਹਮਨੁੱਖਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਸਿਮਰਨਾਸ਼ੁਰੂਕਰਦਾਹੈਤਾਂਉਹਗੁਰੂਨੂੰਪਿਆਰਾਲੱਗਣਲੱਗਪੈਂਦਾਹੈ, ਫਿਰਉਹਜੇਹੜੀਮੁਰਾਦਮੰਗਦਾਹੈਉਹੀਹਾਸਲਕਰਲੈਂਦਾਹੈ।
نامُ دھِیاۓ تا ستِگُرُ بھاۓ جو اِچھےَ سو پھلُ پاۓ ॥
نام دھیائے ۔ الہٰی نام ۔ سچ وحقیقت میں دھیان لگائے ۔ ستگر بھائے ۔ سچے مرشد کا محبوب ہوتا ہے ۔ وجوہ آپ گوائے ۔ خود مٹائے ۔
جو الہٰی نام میں دھیان لگاتا سچے مرشد کا پیارا ہو جاتا ہے اور اپنی خواہشات کی مطابق نتیجے پاتا ہے ۔
ਨਾਨਕਤਿਸਦਾਸਭੁਕਿਛੁਹੋਵੈਜਿਵਿਚਹੁਆਪੁਗਵਾਏ॥੮॥੧॥
naanak tis daa sabh kichh hovai je vichahu aap gavaa-ay. ||8||1||
O’ Nanak, one who eradicates his ego from within, all his spiritual and worldly tasks are accomplished. ||8||1|| ਹੇਨਾਨਕ! ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਆਪਣੇਅੰਦਰੋਂਆਪਾ-ਭਾਵਦੂਰਕਰਲੈਂਦਾਹੈ, ਉਸਦੇਸਾਰੇਕਾਰਜਰਾਸਹੋਜਾਂਦੇਹਨ॥੮॥੧॥
نانک تِس دا سبھُ کِچھُ ہوۄےَ جِ ۄِچہُ آپُ گۄاۓ
اے نانک جو دل سے خویشتا اور نکال دیتا ہے خودی اسکا سب کچھ ہوجاتا ہے ۔
ਸੂਹੀਮਹਲਾ੩॥soohee mehlaa 3.Raag Soohee, Third Guru:
سوُہیِ مہلا ੩॥
ਕਾਇਆਕਾਮਣਿਅਤਿਸੁਆਲ੍ਹ੍ਹਿਉਪਿਰੁਵਸੈਜਿਸੁਨਾਲੇ॥
kaa-i-aa kaaman at su-aaliha-o pir vasai jis naalay.
O’ my friends, the soul-bride, in whose mind is enshrined the Husband-God, becomes extremely beautiful. ਹੇਭਾਈ! (ਗੁਰੂਦੀਬਾਣੀਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲ) ਜਿਸਕਾਂਇਆਂਵਿਚਪ੍ਰਭੂ-ਪਤੀਆਵੱਸਦਾਹੈ, ਉਹਕਾਂਇਆਂ-ਇਸਤ੍ਰੀਬਹੁਤਸੁੰਦਰਬਣਜਾਂਦੀਹੈ।
کائِیا کامنھِ اتِ سُیال٘ہ٘ہِءُ پِرُ ۄسےَ جِسُ نالے ॥
کائیا ۔ جسم ۔ کامن۔ عورت۔ ات نہایت۔ سوآلیؤ ۔ خوبصورت ۔ پر خاوند ۔ نالے ۔ ساتھ ۔
وہ جسم نہایت سندر ہوجاتا ہے جس کا ساتھی خدا ہوجاتا ہے ۔
ਪਿਰਸਚੇਤੇਸਦਾਸੁਹਾਗਣਿਗੁਰਕਾਸਬਦੁਸਮ੍ਹ੍ਹਾਲੇ॥
pir sachay tay sadaa suhaagan gur kaa sabad samHaalay.
The soul-bride who always cherishes the Guru’s word, unites with Husband-God and becomes very fortunate forever. ਜੇਹੜੀਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਨੂੰਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਵਸਾਂਦੀਹੈ, ਸਦਾ-ਥਿਰਪ੍ਰਭੂ-ਪਤੀਦੇਮਿਲਾਪਦੇਕਾਰਨਉਹਸਦਾਲਈਸੁਹਾਗਭਾਗਵਾਲੀਬਣਜਾਂਦੀਹੈ।
پِر سچے تے سدا سُہاگنھِ گُر کا سبدُ سم٘ہ٘ہالے ॥
پر سچے ۔ سچے خاوند ۔ مراد۔ خدا۔ سہاگن۔ خوش قسمت۔ گر کا سبد۔ کلام مرشد۔ سماے ۔ دل میں بسائے ۔
کلام مرشد جو دل میں بساتا ہے سچے خدا کے ملاپ و ساتھ سے خوش قسمت ہوجاتا ہے ۔
ਹਰਿਕੀਭਗਤਿਸਦਾਰੰਗਿਰਾਤਾਹਉਮੈਵਿਚਹੁਜਾਲੇ॥੧॥
har kee bhagat sadaa rang raataa ha-umai vichahu jaalay. ||1||
One who burns his ego from within, becomes imbued with the love for devotional worship of God. ||1|| ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਆਪਣੇਅੰਦਰੋਂਹਉਮੈਸਾੜਲੈਂਦਾਹੈ, ਉਹਸਦਾਵਾਸਤੇਪਰਮਾਤਮਾਦੀਭਗਤੀਦੇਰੰਗਵਿਚਰੰਗਿਆਜਾਂਦਾਹੈ॥੧॥
ہرِ کیِ بھگتِ سدا رنّگِ راتا ہئُمےَ ۄِچہُ جالے
ہر کی بھگت ۔ الہٰی پریم ۔ رنگ راتا۔ پریم میں محو۔ ہونمے ۔ خودی۔ جاے ۔ مٹائے (1)
جو دل سے خودی اور خود پسندی نکال دیتاہے ۔ الہٰی پریم پیار میں محو ومجذوب ہوجاتا ہے (1)
ਵਾਹੁਵਾਹੁਪੂਰੇਗੁਰਕੀਬਾਣੀ॥
vaahu vaahu pooray gur kee banee.
O’ my friends, perfect Guru’s divine words of God’s praises are wonderful. ਹੇਭਾਈ! ਪੂਰੇਗੁਰੂਦੀਬਾਣੀਧੰਨਹੈਧੰਨਹੈ।
ۄاہُ ۄاہُ پوُرے گُر کیِ بانھیِ ॥
واہو ۔ واہو ۔ شاباش ۔
اے میرے دوست مرشد کلام کے الفاظ بہت ہی اچھے اور شاباش والے ہوتے ہیں۔
ਪੂਰੇਗੁਰਤੇਉਪਜੀਸਾਚਿਸਮਾਣੀ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
pooray gur tay upjee saach samaanee. ||1|| rahaa-o.
This emanate from the heart of the true Guru and help the Guru’s follower to merge in God. ||1||Pause|| ਇਹਬਾਣੀਪੂਰੇਗੁਰੂਦੇਹਿਰਦੇਵਿਚੋਂਪੈਦਾਹੁੰਦੀਹੈ, ਅਤੇ (ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਇਸਨੂੰਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਵਸਾਂਦਾਹੈਉਸਨੂੰ) ਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਪਰਮਾਤਮਾਵਿਚਲੀਨਕਰਦੇਂਦੀਹੈ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
پوُرے گُر تے اُپجیِ ساچِ سمانھیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
پورے گر۔ کامل مرشد۔ اپجی ۔ پیدا ہوئی ۔ ساچ ۔ سڈیوی سچ ۔ مراد خدا۔ سمانی ۔ سنبھالی (1) رہاؤ۔
قابل ستائش ہے کامل مرشد کا کلام جو کامل مرشد کے ذہن سے پیدا ہوئی اور انسان کو سچے صدیوی خدا میں محو ومجذوب کر دیتی ہے (1) رہاؤ۔
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਸਭੁਕਿਛੁਵਸੈਖੰਡਮੰਡਲਪਾਤਾਲਾ॥
kaa-i-aa andar sabh kichh vasai khand mandal paataalaa.
All the peace and pleasure of all the continents, galaxies, and the nether regions abides in that body, ਹੇਭਾਈ! ਖੰਡਾਂਮੰਡਲਾਂਪਾਤਾਲਾਂ (ਸਾਰੇਜਗਤ) ਦਾਹਰੇਕਸੁਖਉਸਸਰੀਰਦੇਅੰਦਰਆਵੱਸਦਾਹੈ,
کائِیا انّدرِ سبھُ کِچھُ ۄسےَ کھنّڈ منّڈل پاتالا ॥
کھنڈ۔ زمین کے حصے ۔ منڈل ۔ براعطم۔ پاتالا۔ زیر زمین
اس انسانی جسم میں ہر شے ہے گرض یہ زمین کے حسے براعظم اور زیر زمین ہے
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਜਗਜੀਵਨਦਾਤਾਵਸੈਸਭਨਾਕਰੇਪ੍ਰਤਿਪਾਲਾ॥
kaa-i-aa andar jagjeevan daataa vasai sabhnaa karay partipaalaa.
in which resides God, the bestower of life to the world and sustainer all. ਜਿਸਸਰੀਰਵਿਚਜਗਤਦਾਜੀਵਨਉਹਦਾਤਾਰ-ਪ੍ਰਭੂਪਰਗਟਹੋਜਾਂਦਾਹੈਜੋਸਾਰੇਜੀਵਾਂਦੀਪਾਲਣਾਕਰਦਾਹੈ।
کائِیا انّدرِ جگجیِۄن داتا ۄسےَ سبھنا کرے پ٘رتِپالا ॥
۔ جگجیون داتا۔ زندگی عنیات کرنے والا سخی۔ پرتپالا۔ پرورش ۔
اور اسی جسم میں انسان کو زندگی عنیات کرنے والا خدا بستا ہے جو سب کی پرورش کرتا ہے ۔ 2)
ਕਾਇਆਕਾਮਣਿਸਦਾਸੁਹੇਲੀਗੁਰਮੁਖਿਨਾਮੁਸਮ੍ਹ੍ਹਾਲਾ॥੨॥
kaa-i-aa kaamansadaa suhaylee gurmukh naam samHaalaa. ||2||
The soul of that person, who follows the Guru’s teachings and enshrines Naam in his heart, always dwells in peace. ||2|| ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਕੇਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਵਸਾਂਦਾਹੈਉਸਦੀਕਾਂਇਆਂ-ਇਸਤ੍ਰੀਸਦਾਸੁਖੀਰਹਿੰਦੀਹੈ॥੨॥
کائِیا کامنھِ سدا سُہیلیِ گُرمُکھِ نامُ سم٘ہ٘ہالا ॥੨॥
سہیلی ۔ آرام پاتی ہے ۔ گورمکھ نام سمالا۔ جو مرید مرشد کے وسیلے سے نام دلمیں بساتی ہے ۔ (2)
جو انسان مرید مرشد ہوکر الہٰی نام سچ وحقیقت دل میں بساتا ہے وہ جسم وہ انسان ہمیشہ آرام و آسائش پاتا ہے
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਆਪੇਵਸੈਅਲਖੁਨਲਖਿਆਜਾਈ॥
kaa-i-aa andar aapay vasai alakh na lakhi-aa jaa-ee.
God Himself dwells in the body, but being incomprehensible, He cannot be comprehended. ਹੇਭਾਈ! ਇਸਸਰੀਰਵਿਚਪ੍ਰਭੂਆਪਹੀਵੱਸਦਾਹੈ, ਪਰਉਹਅਦ੍ਰਿਸ਼ਟਹੈ (ਸਧਾਰਨਤੌਰਤੇ) ਵੇਖਿਆਨਹੀਂਜਾਸਕਦਾ।
کائِیا انّدرِ آپے ۄسےَ الکھُ ن لکھِیا جائیِ ॥
الکھ ۔ عقل و ہوش سے بعید۔ لکھائے ۔ سجھا ۔ منمکھ ۔ مرید من۔
اسی جسم میں خدا بستا ہے جو انسانی عقل و ہوش سے بعید اور آنکھوں سے اوجھل ہے ۔ سمجھ نہیں آسکتا ۔

ਮਨਮੁਖੁਮੁਗਧੁਬੂਝੈਨਾਹੀਬਾਹਰਿਭਾਲਣਿਜਾਈ॥
manmukh mugaDh boojhai naahee baahar bhaalan jaa-ee.
The foolish self-willed person does not understand this fact and wanders outside to search for God. ਆਪਣੇਮਨਦੇਪਿੱਛੇਤੁਰਨਵਾਲਾਮੂਰਖਮਨੁੱਖ (ਇਹਭੇਤ) ਨਹੀਂਸਮਝਦਾ,ਉਹਪ੍ਰਭੂਨੂੰਬਾਹਰ (ਜੰਗਲਆਦਿਕਵਿਚ) ਲੱਭਣਤੁਰਪੈਂਦਾਹੈ।
منمُکھُ مُگدھُ بوُجھےَ ناہیِ باہرِ بھالنھِ جائیِ ॥
مگدھ ۔ بیوقوف۔ جاہل۔ بھالن ۔ تلاش ۔
بیوقوف جاہل سمجھتا بھی نہیں۔ جو خدمت مرشد کرتا ہے ۔ مرید من خودی پسند سمجھتا نہیں باہر تلاش کرنے کے لئے جاتا ہے ۔

ਸਤਿਗੁਰੁਸੇਵੇਸਦਾਸੁਖੁਪਾਏਸਤਿਗੁਰਿਅਲਖੁਦਿਤਾਲਖਾਈ॥੩॥
satgur sayvay sadaa sukh paa-ay satgur alakhditaa lakhaa-ee. ||3||
One who follows the Guru’s teachings, always enjoys peace because the true Guru has revealed to him the incomprehensible God. ||3|| ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੀਸਰਨਆਪੈਂਦਾਹੈ, ਉਹਸਦਾਆਤਮਕਆਨੰਦਮਾਣਦਾਹੈਕਿਉਂਕਿਗੁਰੂਨੇਉਸਨੂੰਅਦ੍ਰਿਸ਼ਟਪ੍ਰਭੂਵਿਖਾਦਿੱਤਾ॥੩॥
ستِگُرُ سیۄے سدا سُکھُ پاۓ ستِگُرِ الکھُ دِتا لکھائیِ ॥੩॥
سیوے ۔ خدمت کرے (3)
جو گرو کی تعلیمات پر عمل کرتا ہے ، اسے ہمیشہ سکون حاصل ہوتا ہے کیوں کہ سچے گرو نے اس پر ناقابل فہم خدا کو انکشاف کیا ہے (3)
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਰਤਨਪਦਾਰਥਭਗਤਿਭਰੇਭੰਡਾਰਾ॥
kaa-i-aa andar ratan padaarath bhagatbharay bhandaaraa.
The devotional worship of God is like the precious gems and the human body is overflowing with the treasure of these gems. ਹੇਭਾਈ! ਪਰਮਾਤਮਾਦੀਭਗਤੀ (ਮਾਨੋ) ਰਤਨਪਦਾਰਥਹੈ (ਇਹਨਾਂਰਤਨਾਂਪਦਾਰਥਾਂਦੇ) ਖ਼ਜ਼ਾਨੇਇਸਮਨੁੱਖਸਰੀਰਵਿਚਭਰੇਪਏਹਨ।
کائِیا انّدرِ رتن پدارتھ بھگتِ بھرے بھنّڈارا ॥
جو انسان مرید مرشد ہوجاتا ہے اس ذہن وسجم کی پڑتال کرتا ہے اسی ذہن میں قیمتی اشیا کے خزانے اور الہٰی پریم پیارکے خزانے بھرے ہوتے ہیں۔
ਇਸੁਕਾਇਆਅੰਦਰਿਨਉਖੰਡਪ੍ਰਿਥਮੀਹਾਟਪਟਣਬਾਜਾਰਾ॥
is kaa-i-aa andar na-u khand parithmee haat patan baajaaraa.
This body has within it all the provisions to earn the wealth of Naam, as if it has all the nine regions of the world with its shops, markets and towns. ਇਸਸਰੀਰਦੇਅੰਦਰਹੀ (ਮਾਨੋ) ਸਾਰੀਧਰਤੀਦੇਹੱਟਬਾਜ਼ਾਰਤੇਸ਼ਹਰ (ਵੱਸਰਹੇਹਨ।ਗੁਰੂਦੀਬਾਣੀਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲਮਨੁੱਖਅੰਦਰਹੀਨਾਮਧਨਵਿਹਾਝਦਾਹੈ)।
اِسُ کائِیا انّدرِ نئُکھنّڈ پ٘رِتھمیِ ہاٹ پٹنھ باجارا ॥
تو کھنڈ پرتھمی ۔ زمین کے نو براعظم ۔ ہاٹ۔ دکانیں۔ یا جارا۔ بازار۔
اسی جسم میں زمین کے نو براعظم خطے اور زیر زمین ہے دکانیں اور بازار ہیں
ਇਸੁਕਾਇਆਅੰਦਰਿਨਾਮੁਨਉਨਿਧਿਪਾਈਐਗੁਰਕੈਸਬਦਿਵੀਚਾਰਾ॥੪॥
is kaa-i-aa andar naam na-o niDh paa-ee-ai gur kai sabad veechaaraa. ||4||
By reflecting on the Guru’s word, one can realize Naam within this body, which is like all the nine treasures of the world. ||4|| ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਵਿਚਾਰਕਰਕੇਇਸਸਰੀਰਦੇਵਿਚੋਂਹੀਨਾਮਪ੍ਰਾਪਤਹੋਜਾਂਦਾਹੈਜੇਹੜਾ (ਮਾਨੋਧਰਤੀਦੇ) ਨੌਹੀਖ਼ਜ਼ਾਨੇਹੈ॥੪॥
اِسُ کائِیا انّدرِ نامُ نءُ نِدھِ پائیِئےَ گُر کےَ سبدِ ۄیِچارا ॥੪॥
نام۔ الہٰی نام۔ سچ وحقیقت مراد خدا ۔ نوندھ ۔ دنیاوی نعمتوں کے نو خزانے ۔ گر کے سبد وچار۔ کلام مرشد کو سمجھنے سے ۔
اسی جسم میں الہٰی نام سچ وحقیقت کے نو خزانے ہیں جو کلام مرشد کو سمجھنے اور سوچنے سے ملتے ہیں۔
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਤੋਲਿਤੁਲਾਵੈਆਪੇਤੋਲਣਹਾਰਾ॥
kaa-i-aa andar tol tulaavai aapay tolanhaaraa.
In the human body also dwells God who evaluates people’s spiritual worth. ਹੇਭਾਈ! ਇਸਮਨੁੱਖਾਸਰੀਰਵਿਚਨਾਮ-ਰਤਨਦੀਪਰਖਕਰਨਵਾਲਾਪ੍ਰਭੂਆਪਹੀਵੱਸਦਾਹੈ,
کائِیا انّدرِ تولِ تُلاۄےَ آپے تولنھہارا ॥
تول تلاوے ۔ پیمانہ تولنے یا قیمت اندازی کا مراد اوصاف کا اندازہ کرنیکا۔ تولنہار۔ قیمت اندازی ۔
اس انسانی جسم کے اندر نرخ کرنے اور پر کھنے نیک و بد کی تمیز کرنے والا الہٰی نام سچ وحقیقت بستا ہے ۔
ਇਹੁਮਨੁਰਤਨੁਜਵਾਹਰਮਾਣਕੁਤਿਸਕਾਮੋਲੁਅਫਾਰਾ॥
ih man ratan javaahar maanak tis kaa mol afaaraa.
The mind which has the wealth of jewel-like Naam is extremely valuable. ਇਹਮਨ, ਹੀਰਾ, ਜਵੇਹਰਅਤੇਲਾਲਹੈ, ਬਹੁਤਹੀਜ਼ਿਆਦਾਹੈਜਿਸਦਾਮੁੱਲ।
اِہُ منُ رتنُ جۄاہر مانھکُ تِس کا مولُ اپھارا ॥
مول اپھار۔ بھاری قیمت ۔
یہ انسانی دل ہی نہایت قیمتی ہے ۔ قیمتی ہیروں جواہرات کی طرح ان سے بھی زیادہ قیمتی ہے ۔یہی من قلب یا ذہن انتا قیمتی ہو جاتا ہے ۔
ਮੋਲਿਕਿਤਹੀਨਾਮੁਪਾਈਐਨਾਹੀਨਾਮੁਪਾਈਐਗੁਰਬੀਚਾਰਾ॥੫॥
mol kit hee naam paa-ee-ai naahee naam paa-ee-ai gur beechaaraa. ||5||
Naam cannot be purchased at any price, it is attained only by reflecting on the Guru’s teachings. ||5|| ਕਿਸੇਮੁੱਲਭੀਇਨਸਾਨਨੂੰਨਾਮਪਰਾਪਤਨਹੀਂਹੁੰਦਾ।ਗੁਰਾਂਦੀਬਾਣੀਦਾਵੀਚਾਰਕਰਨਦੁਆਰਾਪਾਇਆਜਾਂਦਾਹੈ।॥੫॥
مولِ کِت ہیِ نامُ پائیِئےَ ناہیِ نامُ پائیِئےَ گُر بیِچارا ॥੫॥
مول کت ہی ۔ کسے قیمت ہی ۔ گرویچار۔ سبق وخیالات مرشد سے (5)
اور الہٰی نام کسی قیمت سے حاصل نہیں ہوتا یہ سبق مرشد سے حاصل ہوتا ہے (5)
ਗੁਰਮੁਖਿਹੋਵੈਸੁਕਾਇਆਖੋਜੈਹੋਰਸਭਭਰਮਿਭੁਲਾਈ॥gurmukh hovai so kaa-i-aa khojai hor sabhbharam bhulaa-ee.O’ my friends, the one who is a Guru’s follower, looks for Naam in his own body; the rest of the world is lost in doubt. ਹੇਭਾਈ! ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਂਦਾਹੈਉਹ (ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਨਾਮਦੀਪ੍ਰਾਪਤੀਵਾਸਤੇ) ਆਪਣੇਸਰੀਰਨੂੰਹੀਖੋਜਦਾਹੈ।ਬਾਕੀਦੀਲੁਕਾਈਭਟਕਣਾਵਿਚਪੈਕੇਕੁਰਾਹੇਪਈਰਹਿੰਦੀਹੈ।
گُرمُکھِ ہوۄےَ سُ کائِیا کھوجےَ ہور سبھ بھرمِ بھُلائیِ ॥
بھرم۔ بھٹکن ۔ بھلائی۔ گمراہی ۔
مرید مرشد ہوکر اس جسم کی ہی پرکھ کرتا ہے اسی میں سچ حقیقت الہٰی نام کی تلاش کرتا ہے ۔ باقی سارے لوگ گمراہی میں بھٹکن میں پڑے رہتے ہیں۔ جسے خدا دیتا ہے وہی حآصل کرتا ہے ۔
ਜਿਸਨੋਦੇਇਸੋਈਜਨੁਪਾਵੈਹੋਰਕਿਆਕੋਕਰੇਚਤੁਰਾਈ॥
jis no day-ay so-ee jan paavai hor ki-aa ko karay chaturaa-ee.
Only that person realizes Naam, unto whom God bestows it; any other clever tricks can be of no use. ਜਿਸਨੂੰਪਰਮਾਤਮਾਦਿੰਦਾਹੈ, ਕੇਵਲਓਹਹੀਨਾਮਨੂੰਪਾਉਂਦਾਹੈ।ਹੋਰਕਿਹੜੀਚਲਾਕੀਕਿਸੇਕੰਮਆਸਕਦੀਹੈ?
جِس نو دےءِ سوئیِ جنُ پاۄےَ ہور کِیا کو کرے چتُرائیِ ॥
چترائی۔ چالاکی ۔
۔ الہٰی نام حاصل ہوتا ہے اسمیں کسی کی دانائی یا چالاکی کام نہیں آتی
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਭਉਭਾਉਵਸੈਗੁਰਪਰਸਾਦੀਪਾਈ॥੬॥
kaa-i-aa andar bha-o bhaa-o vasai gur parsaadee paa-ee. ||6||
Within the body also reside the respectful fear and love of God, but they too are realized by Guru’s grace. ||6|| ਦੇਹੀਵਿੱਚਪ੍ਰਭੂਦਾਡਰਅਤੇਪ੍ਰੇਮਵਸਦੇਹਨ।ਗੁਰਾਂਦੀਰਹਿਮਤਸਦਕਾਉਹਪਾਏਜਾਂਦੇਹਨ॥੬॥
کائِیا انّدرِ بھءُ بھاءُ ۄسےَ گُر پرسادیِ پائیِ ॥੬॥
بھؤ ۔ خوف۔ ادب۔ بھاؤ ۔ پریم پیار۔ گر پرسادی۔ رحمت مرشد (6)
اس جسم میں الہٰی خوف ادب آداب اور محبت بس جاتا ہے رحمت مرشد سے ہی
ਕਾਇਆਅੰਦਰਿਬ੍ਰਹਮਾਬਿਸਨੁਮਹੇਸਾਸਭਓਪਤਿਜਿਤੁਸੰਸਾਰਾ॥
kaa-i-aa andar barahmaa bisan mahaysaa sabh opat jit sansaaraa.
O’ my friends, within the body resides that Creator from whom gods like Brahma, Vishnu, Mahesh and the rest of the world came into existence. ਹੇਭਾਈ! ਇਸਸਰੀਰਵਿਚਉਹਪਰਮਾਤਮਾਵੱਸਰਿਹਾਹੈ, ਜਿਸਤੋਂਬ੍ਰਹਮਾ, ਬਿਸ਼ਨ, ਸ਼ਿਵਅਤੇਹੋਰਸਾਰੀਸ੍ਰਿਸ਼ਟੀਦੀਉਤਪਤੀਹੋਈਹੈ।
کائِیا انّدرِ ب٘رہما بِسنُ مہیسا سبھ اوپتِ جِتُ سنّسارا ॥
سب اوپت جت سنسار۔ جس سے سنسار پیدا ہوئی ہے ۔
اسی جسم میں برہما وشنو اور شوجی بستے ہیں جن سے سارے عالم کی پدائش ہوئی ہے ۔
ਸਚੈਆਪਣਾਖੇਲੁਰਚਾਇਆਆਵਾਗਉਣੁਪਾਸਾਰਾ॥
sachai aapnaa khayl rachaa-i-aa aavaa ga-on paasaaraa.
The eternal has set up His play and the cycle of birth and death is its expanse.ਸਦਾ-ਥਿਰਪ੍ਰਭੂਨੇ (ਇਹਜਗਤ) ਆਪਣਾਇਕਤਮਾਸ਼ਾਰਚਿਆਹੋਇਆਹੈਇਹਜੰਮਣਮਰਨਇਕਖਿਲਾਰਾਖਿਲਾਰਦਿੱਤਾਹੈ।
سچےَ آپنھا کھیلُ رچائِیا آۄا گئُنھُ پاسارا ॥
آواگون ۔ موت و پیدائش ۔ پسار۔ دنیاوی پھیلاؤ ۔
صدیوی سچے خدا نے یہ عالم اپنے لئے ایک کھیل اور تماشا بنائیا ہے ۔یہ موت و پدیائش اسکا پھیلاؤ جسے
ਪੂਰੈਸਤਿਗੁਰਿਆਪਿਦਿਖਾਇਆਸਚਿਨਾਮਿਨਿਸਤਾਰਾ॥੭॥
poorai satgur aap dikhaa-i-aa sach naam nistaaraa. ||7||
The person whom the perfect Guru has himself shown this truth, is emancipated by getting attuned to the Name of God. ||7|| ਜਿਸਮਨੁੱਖਨੂੰਪੂਰੇਗੁਰੂਨੇ (ਇਹਅਸਲੀਅਤ) ਵਿਖਾਦਿੱਤੀ, ਸਦਾ-ਥਿਰਪ੍ਰਭੂਦੇਨਾਮਵਿਚਜੁੜਕੇਉਸਮਨੁੱਖਦਾਪਾਰ-ਉਤਾਰਾਹੋਗਿਆ॥੭॥
پوُرےَ ستِگُرِ آپِ دِکھائِیا سچِ نامِ نِستارا ॥੭॥
سچ نام ۔ صدیوی سچ و حقیقت ۔ نستار ۔ فیصلہ ۔ نتیجہ
کامل سچے مرشد نےاسکی حقیقت سمجھا دی وہ سچ وحقیقت اپنا کر اپنی زندگی کامیاب بنا لیتا ہے
ਸਾਕਾਇਆਜੋਸਤਿਗੁਰੁਸੇਵੈਸਚੈਆਪਿਸਵਾਰੀ॥
saa kaa-i-aa jo satgur sayvai sachai aap savaaree.
O’ my friends, that person alone is accomplished which follows the teachings of the true Guru; God Himself has embellished that person. ਹੇਭਾਈ! ਉਹੀਸਰੀਰਸਫਲਹੈਜੇਹੜਾਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਂਦਾਹੈ।ਉਸਸਰੀਰਨੂੰਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਕਰਤਾਰਨੇਆਪਸੋਹਣਾਬਣਾਦਿੱਤਾ।
سا کائِیا جو ستِگُرُ سیۄےَ سچےَ آپِ سۄاریِ ॥
ساکائیا۔ وہ جسم وہ انسان سگتر سیوے ۔ سچے مرشد کی خدمت کرے ۔ سچے آپ سواری ۔ خدا خود اسے سنوارتا سجاتا ہے ۔
) وہ انسان جو خدمت مرشد کرتا ہے خدا خود اسے سنتارتا اور بناؤ شنگار کرتا ہے ۔
ਵਿਣੁਨਾਵੈਦਰਿਢੋਈਨਾਹੀਤਾਜਮੁਕਰੇਖੁਆਰੀ॥
vin naavai dar dho-ee naahee taa jam karay khu-aaree.
Without meditating on Naam, one finds no refuge in God’s presence and the demon of death punishes him. ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਨਾਮਤੋਂਬਿਨਾਪਰਮਾਤਮਾਦੇਦਰਤੇਖਲੋਣਾਨਹੀਂਮਿਲਦਾ।ਤਦੋਂ (ਅਜੇਹੇਮਨੁੱਖਨੂੰ) ਜਮਰਾਜਖ਼ੁਆਰਕਰਦਾਹੈ।
ۄِنھُ ناۄےَ درِ ڈھوئیِ ناہیِ تا جمُ کرے کھُیاریِ ॥
بن ناوے ۔ نام سچ وحقیقت کے بغیر۔ ڈہوئی ۔ آسرا۔ تاجم کرے خواری ۔ فرشتہ موت زلیل وخوار کرتا ہے ۔
الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر انسان کو الہٰی در پر ٹھکانہ حاصل نہیں ہوتا فرشتہ موت اسے ذلیل خوار کرتا ہے ۔
ਨਾਨਕਸਚੁਵਡਿਆਈਪਾਏਜਿਸਨੋਹਰਿਕਿਰਪਾਧਾਰੀ॥੮॥੨॥
naanak sach vadi-aa-ee paa-ay jis no har kirpaa Dhaaree. ||8||2||
O’ Nanak, only that person attains true glory on whom God bestows His mercy. ||8||2||
ਹੇਨਾਨਕ! ਜਿਸਮਨੁੱਖਉਤੇਪ੍ਰਭੂਕਿਰਪਾਕਰਦਾਹੈ, ਉਸਨੂੰਆਪਣਾਨਾਮਬਖ਼ਸ਼ਦਾਹੈ (ਇਹੀਉਸਵਾਸਤੇਸਭਤੋਂਵੱਡੀ) ਇੱਜ਼ਤਹੈ॥੮॥੨॥
نانک سچُ ۄڈِیائیِ پاۓ جِس نو ہرِ کِرپا دھاریِ ॥੮॥੨॥
سچ وڈیائی پائے ۔ حقیقت سے عظمت اور بزرگی حاصل ہوتی ہے ۔ ہر کرپا دھاری ۔ جس پر خدا مہربان ہوتا ہے
اے نانک۔ جس پر خدا مہربان ہوتا ہے ۔ سچی صدیوی عطمت و بزرگی پاتا ہے اور الہٰی نام سچ عنایت کرتا ہے ۔