Urdu-Raw-Page-658

ਰਾਜਭੁਇਅੰਗਪ੍ਰਸੰਗਜੈਸੇਹਹਿਅਬਕਛੁਮਰਮੁਜਨਾਇਆ॥
raaj bhu-i-ang parsang jaisay heh ab kachh maram janaa-i-aa.
Like the story of the rope mistaken for a snake, another mystery has now been explained to me. ਜਿਸਤਰ੍ਹਾਂਰੱਸੀਨੂੰਸੱਪਸਮਝਣਦੀਕਹਾਣੀਹੈ, ਇਸਤਰ੍ਹਾਂਮੈਨੂੰਹੁਣਕੁਝਭੇਦ,ਦਰਸਾਇਆਗਿਆਹੈ।
راج بھُئِئنّگ پ٘رسنّگ جیَسے ہہِ اب کچھُ مرمُ جنائِیا ॥
راج۔ رسی ۔ بھؤنگ ۔ سناپ۔ پرسنگ۔ کہانی۔ مرم ۔راز۔ بھید۔
جیسے سانپ رسی کی کہانی رسی کو سانپ سمجھ لیتے ہیں
ਅਨਿਕਕਟਕਜੈਸੇਭੂਲਿਪਰੇਅਬਕਹਤੇਕਹਨੁਨਆਇਆ॥੩॥
anik katak jaisay bhool paray ab kahtay kahan na aa-i-aa. ||3||
Looking at different kinds of gold bracelets, one may mistake them as made of different materials, but in reality these are all gold, similarly we are misled to believe that this creation is different from God. ||3|| ਜਿਵੇਂ (ਸੋਨੇਤੋਂਬਣੇਹੋਏ) ਅਨੇਕਾਂਕੜੇਵੇਖਕੇਭੁਲੇਖਾਪੈਜਾਏਕਿਸੋਨਾਹੀਕਈਕਿਸਮਦਾਹੁੰਦਾਹੈ, ਤਿਵੇਂਅਸਾਨੂੰਭੁਲੇਖਾਬਣਿਆਪਿਆਹੈਕਿਇਹਜਗਤਤੈਥੋਂਵੱਖਰਾਹੈ)।॥੩॥
انِک کٹک جیَسے بھوُلِ پرے اب کہتے کہنُ ن آئِیا ॥੩॥
کٹک۔ کڑے ۔ انک۔ بیشمار۔ بھول پرے ۔ بھو گئے ۔ (3)
جیسے سونا اور سونے کے بنے کنگن کو علیحدہ علیحدہ سمجھ لیتے ہیں ۔ مگر پرانی تفرقات والی بات اب نہیں دہراتا ۔حکومت ہونے کے باوجو د حکمرانی سے جدا ہوکر عذآب پاتا ہے ۔ ایسے ہی ہمار احال ہے خدا سے پاکر ہمارا حال ہے
ਸਰਬੇਏਕੁਅਨੇਕੈਸੁਆਮੀਸਭਘਟਭੋੁਗਵੈਸੋਈ॥
sarbay ayk anaykai su-aamee sabhghat bhogvai so-ee.
Amidst all, the one God has assumed many forms, and He is enjoying pervading all the hearts. ਉਹਪ੍ਰਭੂ-ਖਸਮਅਨੇਕਾਂਰੂਪਬਣਾਕੇਸਾਰਿਆਂਵਿਚਇੱਕਆਪਹੀਹੈ, ਸਭਘਟਾਂਵਿਚਆਪਹੀਬੈਠਾਜਗਤਦੇਰੰਗਮਾਣਰਿਹਾਹੈ।
سربے ایکُ انیکےَ سُیامیِ سبھ گھٹ بھد਼گۄےَ سوئیِ ॥
سرے ۔ سب میں۔ ایک ۔ واحد۔ انیکے ۔ بیشمار ہوکر۔ بھگوے ۔ موجود ہ ۔ سوئی۔ وہی ۔
خدا بیشمار شکلوں صورتوں میں واحداخدا بس رہا ہے اور سب دلوں میں بس کر سب سے پریم کرتا ہے ۔
ਕਹਿਰਵਿਦਾਸਹਾਥਪੈਨੇਰੈਸਹਜੇਹੋਇਸੁਹੋਈ॥੪॥੧॥
kahi ravidaas haath pai nayrai sehjay ho-ay so ho-ee. ||4||1||
Ravi Das says, God is nearer to us than even our hands, and whatever is happening, is happening in His will. ||4||1|| ਰਵਿਦਾਸਆਖਦਾਹੈਕਿ (ਦੂਰਨਹੀਂ) ਮੇਰੇਹੱਥਤੋਂਭੀਨੇੜੇਹੈ, ਜੋਕੁਝਜਗਤਵਿਚਵਰਤਰਿਹਾਹੈ, ਉਸੇਦੀਰਜ਼ਾਵਿਚਹੋਰਿਹਾਹੈ॥੪॥੧॥
کہِ رۄِداس ہاتھ پےَ نیرےَ سہجے ہوءِ سُ ہوئیِ ॥੪॥੧॥
ہاتھ پر نیرے ۔ ہاتھ سے بھی نزدیک ہے ۔ سہجے ۔ قدرتی طور پر ۔ ازخود۔ اسکی رضامیں۔
اے رودیاس بتادے کہ ہاتھ سے بھی زندیک ہے دورہیں جو کچھ دنیامیں ہو رہا ہے اسکی رضا سے ہو رہا ہے ۔
ਜਉਹਮਬਾਂਧੇਮੋਹਫਾਸਹਮਪ੍ਰੇਮਬਧਨਿਤੁਮਬਾਧੇ॥
ja-o ham baaNDhay moh faas ham paraym baDhan tum baaDhay.
O’ God, if we are bound in the worldly attachments, then remember that we have also bound You in the bonds of our love.
ਹੇਮਾਧੋ!) ਜੇਅਸੀਂਮੋਹਦੀਫਾਹੀਵਿਚਬੱਝੇਹੋਏਹਾਂ , ਤਾਂਅਸਾਂਤੈਨੂੰਆਪਣੇਪਿਆਰਦੀਰੱਸੀਨਾਲਬੰਨ੍ਹਲਿਆਹੈ।
جءُ ہم باںدھے موہ پھاس ہم پ٘ریم بدھنِ تُم بادھے ॥
موہ پھاس۔ محبت کے پھند ے میں۔ پریم بندھن ۔ پیارکی بندش میں۔
اے خدایا اگر ہم دنیاوی لگاؤ میں جکڑے ہوئے ہیں تو یاد رکھنا کہ ہم نے بھی آپ کو اپنی محبت کے بندھن میں باندھ رکھا ہے

ਅਪਨੇਛੂਟਨਕੋਜਤਨੁਕਰਹੁਹਮਛੂਟੇਤੁਮਆਰਾਧੇ॥੧॥
apnay chhootan ko jatan karahu ham chhootay tum aaraaDhay. ||1||
We have escaped from the worldly bonds by remembering You with adoration; You better make efforts for Your escape from the bonds of our love. ||1|ਅਸੀਂਤਾਂਮੋਹਦੀਫਾਹੀਵਿਚੋਂਤੈਨੂੰਸਿਮਰਕੇਨਿਕਲਆਏਹਾਂ, ਤੂੰਆਪਣੇਛੁਟਣਦਾਯਤਨਕਰ॥੧॥
اپنے چھوُٹن کو جتنُ کرہُ ہم چھوُٹے تُم آرادھے ॥੧॥
جتن ۔ کوشش۔ ارادھے ۔ ریاض و عبادت (1)
اے خدا جب ہم محبت کے پھندے میں گرفتار تھے ہم نے تجھے اپنے محبت کی گرفت میں لے لیا ہے ۔ ہم نے تو محبت کے پھندے سے تیری عبادت وریاضت اور تیری یاد سے اپنے آپ کو آزاد کرالیا ہے ۔
ਮਾਧਵੇਜਾਨਤਹਹੁਜੈਸੀਤੈਸੀ॥
maaDhvay jaanat hahu jaisee taisee.
O’ God, You know the kind of love Your devotees have for You. ਹੇਮਾਧੋ! ਤੇਰੇਭਗਤਜਿਹੋਜਿਹਾਪਿਆਰਤੇਰੇਨਾਲਕਰਦੇਹਨਤੂੰਉਹਚੰਗੀਤਰ੍ਹਾਂਜਾਣਦਾਹੈਂ।
مادھۄے جانت ہہُ جیَسیِ تیَسیِ ॥
مادہوے ۔ اے خدا۔ جانت ہو۔ سمجھتے ہو۔ جیسی ۔ جیسا پیار تجھ سے ہے ۔ایسی ۔ ایسے پیار کےہوتے ہوئے
اے خدا ، آپ کو معلوم ہے کہ آپ کے بھکتوں نے آپ سے کس طرح کی محبت کی ہے
ਅਬਕਹਾਕਰਹੁਗੇਐਸੀ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
ab kahaa karhugay aisee. ||1|| rahaa-o.
Such being our love for You, now, what would You do? ||1||Pause|| ਤੇਰੇਨਾਲਸਾਡੀਐਹੋਜੇਹੀਪ੍ਰੀਤਹੁੰਦਿਆਂਹੁਣਤੂੰਸਾਡੇਨਾਲਕੀਕਰੇਂਗਾ?॥੧॥ਰਹਾਉ॥
اب کہا کرہُگے ایَسیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
اب کہا کروگے ۔ ابکیا کروگے ۔ الیسی ۔ اسطرح ۔رہاو
ابہمارے پیار کی گرفت سے نجات پانے کی کوشش کیجیئے (1)
ਮੀਨੁਪਕਰਿਫਾਂਕਿਓਅਰੁਕਾਟਿਓਰਾਂਧਿਕੀਓਬਹੁਬਾਨੀ॥
meen pakar faaNki-o ar kaati-o raaNDh kee-o baho baanee.
Just as a fish is caught, cut into pieces and cooked in many ways and ਮੱਛੀਪਾਣੀਵਿਚੋਂਫੜਕੇਫਾਂਕਾਂਕਰਦੇਈਏ, ਟੋਟੇਕਰਦੇਈਏਤੇਕਈਤਰ੍ਹਾਂਰਿੰਨ੍ਹਲਈਏ,
میِنُ پکرِ پھاںکِئو ارُ کاٹِئو راںدھِ کیِئو بہُ بانیِ ॥
مین ۔ مچھلی ۔ پھانکیؤ۔ پکڑ کر۔ راند کیؤ۔پکائی۔ بہوبانی ۔ بہت سے طریقوں سے
ہمار اتماہرے ساتھ اس مچھلی جیسا ہےجسے پکڑ کرٹکڑے ٹکڑے کر دیئے بہت سے طریقوں سے پکائیا
ਖੰਡਖੰਡਕਰਿਭੋਜਨੁਕੀਨੋਤਊਨਬਿਸਰਿਓਪਾਨੀ॥੨॥
khand khand kar bhojan keeno ta-oo na bisri-o paanee. ||2||
consumed bit by bit; even then it does not forget the water, it makes the consumer thirsty for water. (O’ God, similar is our love for You). ||2|| ਫਿਰਰਤਾਰਤਾਕਰਕੇਖਾਲਈਏ, ਫਿਰਭੀਉਸਮੱਛੀਨੂੰਪਾਣੀਨਹੀਂਭੁੱਲਦਾ, ਖਾਣਵਾਲੇਨੂੰਭੀਪਾਣੀਦੀਪਿਆਸਲਗਾਦੇਂਦੀਹੈ l (ਹੇਮਾਧੋ!ਸਾਡਾਤੇਰੇਨਾਲਪਿਆਰਭੀਉਹਹੈਜੋਮੱਛੀਨੂੰਪਾਣੀਨਾਲਹੁੰਦਾਹੈ)॥੨॥
کھنّڈ کھنّڈ کرِ بھوجنُ کیِنو تئوُ ن بِسرِئو پانیِ ॥੨॥
گھنڈ کھنڈ کر۔ ٹکڑے ٹکڑے کرکے ۔ بھوجن۔کھائی۔ تؤ ۔ تب بھی ۔ وسریؤ۔ بھولیؤ۔(2)
اور چھوٹی چھوٹی کرکے کھائی ۔ مگر پھر بھی پانی نہیںبھولتی ( کیونکہ کھانے والا پانی کی پیاس محسوس کرتا ہے ) (2)
ਆਪਨਬਾਪੈਨਾਹੀਕਿਸੀਕੋਭਾਵਨਕੋਹਰਿਰਾਜਾ॥
aapan baapai naahee kisee ko bhaavan ko har raajaa.
God, the sovereign king is not anyone’s ancestral property; He is bound by the love of His devotees. ਜਗਤਦਾਮਾਲਕਹਰੀਰਾਜਾਕਿਸੇਦੇਪਿਉਦੀ (ਜੱਦੀਮਲਕੀਅਤ) ਨਹੀਂਹੈ, ਉਹਤਾਂਪ੍ਰੇਮਦਾਬੱਝਾਹੋਇਆਹੈ।
آپن باپےَ ناہیِ کِسیِ کو بھاۄن کو ہرِ راجا ॥
آپن باپے ۔ اپنے باپ کی ۔ بھاونکو۔ پیار کے لئے ۔ ہر راجہ ۔خدا۔
خدا کسی کے باپ سے ملی ہوئی وراثتی جائیداد نہیں۔ وہ تو عشق کا دلدادہ ہے
ਮੋਹਪਟਲਸਭੁਜਗਤੁਬਿਆਪਿਓਭਗਤਨਹੀਸੰਤਾਪਾ॥੩॥
moh patal sabh jagat bi-aapi-o bhagat nahee santaapaa. ||3||
This entire world is entangled in the mesh of worldly attachments, but the devotees of God are not afflicted with this distress. ||3|| ਸਾਰਾਜਗਤਮੋਹਦੇਪਰਦੇਵਿਚਫਸਿਆਪਿਆਹੈ, ਪਰਪ੍ਰਭੂਨਾਲਪ੍ਰੇਮਕਰਨਵਾਲੇਭਗਤਾਂਨੂੰਇਸਮੋਹਦਾਕੋਈਕਲੇਸ਼ਨਹੀਂਹੁੰਦਾ॥੩॥
موہ پٹل سبھُ جگتُ بِیاپِئو بھگت نہیِ سنّتاپا ॥੩॥
موہ پٹل۔محبت کے پروے ۔ سب جگت۔ سارا عالم ۔ دیابیا۔ رائج ہے ۔ بس رہا ہے ۔ بھگت ۔ پریم ۔سنتاپ۔ جھگڑا عنایت (3)
مگر سارا عالم اس پیار اور عشق سے خالی ہے اوردنیاوی محبت کی گرفت میںہے ۔ مگر عاشقان الہٰی اس دنیاو محبتکی گرافت سے آزاد ہوتےہیں
ਕਹਿਰਵਿਦਾਸਭਗਤਿਇਕਬਾਢੀਅਬਇਹਕਾਸਿਉਕਹੀਐ॥
kahi ravidaas bhagat ik baadhee ab ih kaa si-o kahee-ai.
Ravi Das says, O’ God my devotion to You has multiplied so much, I do not have to say about this to anyone now. ਰਵਿਦਾਸਆਖਦਾਹੈ(ਹੇਮਾਧੋ!)ਮੈਂਤੇਰੀਭਗਤੀਇਤਨੀਦ੍ਰਿੜ੍ਹਕੀਤੀਹੈਕਿਮੈਨੂੰਹੁਣਕਿਸੇਨਾਲਇਹਗੱਲਕਰਨਦੀਲੋੜਹੀਨਹੀਂਰਹੀ।
کہِ رۄِداس بھگتِ اِک باڈھیِ اب اِہ کا سِءُ کہیِئےَ ॥
بھگت ۔ الہٰی عشق ۔ باڈھی ۔ بڑھ گیا۔ کاسیؤ ۔ کس سے ۔
اے رویدداس بتادے کہ اے خدا میں تیری محبت میرے دل میں اتنی زیادہ ہوگئی ہے
ਜਾਕਾਰਨਿਹਮਤੁਮਆਰਾਧੇਸੋਦੁਖੁਅਜਹੂਸਹੀਐ॥੪॥੨॥
jaa kaaran ham tum aaraaDhay so dukh ajhoo sahee-ai. ||4||2||
The reason for which I meditated on You, I am still suffering from the pain of separation from You. ||4||2|| ਜਿਸਮੋਹਤੋਂਬਚਣਲਈਮੈਂਤੇਰਾਸਿਮਰਨਕਰਰਿਹਾਸਾਂ, ਉਸਮੋਹਦਾਦੁੱਖਮੈਨੂੰਹੁਣਤਕਸਹਾਰਨਾਪੈਰਿਹਾਹੈ (ਭਾਵ, ਉਸਮੋਹਦਾਤਾਂਹੁਣਮੇਰੇਅੰਦਰਨਾਮਨਿਸ਼ਾਨਹੀਨਹੀਂਰਹਿਗਿਆ) ॥੪॥੨॥
جا کارنِ ہم تُم آرادھے سو دُکھُ اجہوُ سہیِئےَ
جاکارن ۔ جس کی وجہ سے ۔ ارادھے ۔ریاض وعبات کی ۔ اجہو ۔ ابھی بھی ۔ سہیئے ۔ برداشت کر رہا ہوں۔
اسکااظہار کس سے کروں جس محبت سے بچنے کے لئے میں نے اےخدا تیری عبادت وریاضت کی وہی عذاب مجھے اب تک برداشت کرنا پڑتا ہے۔
ਦੁਲਭਜਨਮੁਪੁੰਨਫਲਪਾਇਓਬਿਰਥਾਜਾਤਅਬਿਬੇਕੈ॥
dulabh janam punn fal paa-i-o birthaa jaat abibaykai.
This precious human life is received as a reward for pastgood deeds, but without discerning wisdom, it is being wasted in vain. ਇਹਨਾਯਾਬਮਨੁੱਖੀ-ਜੀਵਨ, ਚੰਗੇਕਰਮਾਂਦੇਸਿਲੇਵਜੋਂਪ੍ਰਾਪਤਹੋਇਆਹੈ, ਪਰਸੋਚ-ਵਿਚਾਰਦੇਬਗੈਰਇਹਵਿਅਰਥਜਾਰਿਹਾਹੈ।
دُلبھ جنمُ پُنّن پھل پائِئو بِرتھا جات ابِبیکےَ ॥
دلھ جنم۔ نایاب قیمتی زندگی ۔ پن پھل۔ نیک اعمال۔ پرتھا ۔ بیکار۔ بے فائدہ ۔ جات۔ جا رہا ہے ۔ ابیبکے ۔ بے سمجھی ۔ نا اہلیت۔
سوچتا نیک اعمال کے نتیجہ کے طور پر انسان کو نایاب زندگی حاصل ہوتی ہے اب نا اہلیت کی جوہ سے بیکار اور بے فائدہ گذر رہی ہے
ਰਾਜੇਇੰਦ੍ਰਸਮਸਰਿਗ੍ਰਿਹਆਸਨਬਿਨੁਹਰਿਭਗਤਿਕਹਹੁਕਿਹਲੇਖੈ॥੧॥
raajay indar samsar garih aasan bin har bhagat kahhu kih laykhai. ||1||
Tell me, without devotional worship of God, of what use are the mansions and thrones of King Indra? ||1||ਪ੍ਰਭੂਦੀਬੰਦਗੀਦੇਬਾਝੋਂਰਾਜੇਇੰਦਰਦੇਮਹਿਲਮਾੜੀਆਂਵਰਗੇਘਰਭੀਦਸਕਿਹੜੀਗਿਣਤੀਵਿੱਚਹਨ?॥੧॥
راجے اِنّد٘ر سمسرِ گ٘رِہ آسن بِنُ ہرِ بھگتِ کہہُ کِہ لیکھےَ ॥੧॥
سمسر۔ برابر۔ گریہہ اسن۔ خت و محلات ۔ بن ہر بھگت ۔ الہٰی پیار کے بغیر۔ کہو ۔ کہہ لیکھے ۔کس کام (1)
الہٰی عبادت و ریاضت اور پریم پیارکے بغیر مہاراجہ اندر کے برابر تخت و محلات کسی کام نہیں (1)

ਨਬੀਚਾਰਿਓਰਾਜਾਰਾਮਕੋਰਸੁ॥
na beechaari-o raajaa raam ko ras.
We have neverreflected on the essence of God’s Name;ਅਸਾਂਪਾਤਿਸ਼ਾਹਪ੍ਰਮੇਸ਼ਰਦੇਨਾਮਦੇਸੁਆਦਨੂੰਨਹੀਂਕਦੇਵਿਚਾਰਿਆ,
ن بیِچارِئو راجا رام کو رسُ ॥
نہ سمجھیا۔ راجا رام کا رس۔ الہٰی نام اک لطف و مزہ ۔ راجا رام کور س۔ جس کے لطف سے ۔ ۔
انسان الہٰی عشق و محبت کے لطف و مزے کی بابت کبھی نہیں
ਜਿਹਰਸਅਨਰਸਬੀਸਰਿਜਾਹੀ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
jih ras an ras beesar jaahee. ||1|| rahaa-o.
this sublime essence causes us to forget all other relishes. ||1||Pause||ਜਿਸਸੁਆਦਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲਹੋਰਸਾਰੇਚਸਕੇਦੂਰਹੋਜਾਂਦੇਹਨ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
جِہ رس ان رس بیِسرِ جاہیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
ان رس۔ دیگر لطف ۔ وسرجاہی ۔ بھول جاتے ہیں۔ رہاؤ۔
جس کے لطف دوسرے مزے بھول جاتے ہیں (1) رہاؤ۔
ਜਾਨਿਅਜਾਨਭਏਹਮਬਾਵਰਸੋਚਅਸੋਚਦਿਵਸਜਾਹੀ॥
jaan ajaan bha-ay ham baavar soch asoch divas jaahee.
Knowingly and unknowingly, we have become ignorant and insane; the days of our lives are passing in good and bad thoughts. ਜਾਣਦੇਬੁੱਝਦੇਹੋਏਭੀਅਸੀਂਕਮਲੇਤੇਮੂਰਖਬਣੇਹੋਏਹਾਂ, ਅਸਾਡੀਉਮਰਦੇਦਿਹਾੜੇਚੰਗੀਆਂਮੰਦੀਆਂਵਿਚਾਰਾਂਵਿਚਗੁਜ਼ਰਰਹੇਹਨ।
جانِ اجان بھۓ ہم باۄر سوچ اسوچ دِۄس جاہیِ ॥
جان اجان۔ بے سمجھی ۔ کو جان کر ۔ باور۔ پاگل۔ سوچ ۔ سمجھ ۔ اسوچ ۔ نا سمجھی ۔ دوس جاہی ۔ دن گذر گئے ۔
سوچتے سمجھتے ہوئے بھی بے قوف ہو رہے ہیں ۔ہماری زندگی کے تمام دن اچھی اور بری سوچوں میں گز گئے۔
ਇੰਦ੍ਰੀਸਬਲਨਿਬਲਬਿਬੇਕਬੁਧਿਪਰਮਾਰਥਪਰਵੇਸਨਹੀ॥੨॥
indree sabal nibal bibayk buDh parmaarath parvays nahee. ||2||
Our lusts and passions are strong, but our sense of discrimination is very weak, and thoughts of acquiring spiritual wisdom do not enter our mind. ||2|| ਸਾਡੀਕਾਮ-ਵਾਸ਼ਨਾਬਲਵਾਨਹੈ, ਵਿਚਾਰ-ਸ਼ਕਤੀਕਮਜ਼ੋਰਹੈ, ਸਾਨੂੰਕਦੇਸੋਚਹੀਨਹੀਂਫੁਰੀਕਿਸਾਡੀਸਭਤੋਂਵੱਡੀਲੋੜਕੀਹਹੈ॥੨॥
اِنّد٘ریِ سبل نِبل بِبیک بُدھِ پرمارتھ پرۄیس نہیِ ॥੨॥
اندر سبل۔ شہوت کے لئے ۔ طاقتور ۔ تیل بیبک بدھ۔ حقیقت سمجھنے طاقت ۔ کمزور ہے ۔ پر مارتھ ہر ویس نہیں۔ سب سے ضروری بلند اہمیت کس چیز کی ہے ۔
شہوت و عیش پر ستی میں طاقتور ہیں جبکہ سوچنے سمجھنے میں تحیف اور کمزور ہیں ۔ اور کھبی خیال نہیںکیا نہ آئیا کہ سب سے اہم ضرورت کیا ہے (2)
ਕਹੀਅਤਆਨਅਚਰੀਅਤਅਨਕਛੁਸਮਝਨਪਰੈਅਪਰਮਾਇਆ॥
kahee-at aan achree-atan kachh samajh na parai apar maa-i-aa.
We say one thing, but do something else; the hold of Maya on us has become so strong that we don’t realize our foolishness. ਅਸੀਂਆਖਦੇਹੋਰਹਾਂਤੇਕਰਦੇਕੁਝਹੋਰਹਾਂ, ਮਾਇਆਇਤਨੀਬਲਵਾਨਹੋਰਹੀਹੈਕਿਅਸਾਨੂੰ (ਆਪਣੀਮੂਰਖਤਾਦੀ) ਸਮਝਹੀਨਹੀਂਪੈਂਦੀ।
کہیِئت آن اچریِئت ان کچھُ سمجھ ن پرےَ اپر مائِیا ॥
کہیت آن۔ کہتے اور میں۔ اچریت ۔ان کچھ ۔ اعمال ۔ کچھ اور ہیں۔ سمجھ نہ پرے ۔ سمجھ نہیںآتی ۔ اپر مائیا ۔قاقتور دنیاوی دولت کی ۔
کہتے اور ہیں اور اعمال اوردنیاوی دلوت کے تاثرات اتنے طاقتور ہیں کہ سمجھ نہیں آتی اپنی حماقت کی ۔ اب میں اپنی حماقت سے غمگین فکر مند اور مایوش ہو گیا ہوں
ਕਹਿਰਵਿਦਾਸਉਦਾਸਦਾਸਮਤਿਪਰਹਰਿਕੋਪੁਕਰਹੁਜੀਅਦਇਆ॥੩॥੩॥
kahi ravidaas udaas daas mat parhar kop karahu jee-a da-i-aa. ||3||3||
O’ God, Your devotee Ravi Das says, I am disillusioned and detached; please, spare me Your anger, and have mercy on my soul. ||3||3||ਹੇਪ੍ਰਭੂ! ਤੇਰਾਦਾਸਰਵਿਦਾਸਆਖਦਾਹੈ- ਮੈਂਉਪਰਾਮਹਾਂ, ਮੇਰੇਤੇਗੁੱਸਾਨਾਹਕਰਨਾਤੇਮੇਰੀਆਤਮਾਉਤੇਮਿਹਰਕਰਨੀ॥੩॥੩॥
کہِ رۄِداس اُداس داس متِ پرہرِ کوپُ کرہُ جیِء دئِیا
اداس۔ غمگین ۔ فکر مند۔ داس مت۔ علق خادمنہ ۔ پر ہر۔ چھوڑ کر۔ کوپ ۔ غسہ۔جیہہ دیا۔ جاندار پر مہربانی
اے کبیر یہ کہہ دے اپنے خدا سے میری اس حماقت کا غصہ نہیں کرتا اور مہربانی کرنی ۔
ਸੁਖਸਾਗਰੁਸੁਰਤਰਚਿੰਤਾਮਨਿਕਾਮਧੇਨੁਬਸਿਜਾਕੇ॥
sukh saagar surtar chintaaman kaamDhayn bas jaa kay.
God is the ocean of peace; the miraculous tree of life, the wish-fulfilling gem, and the Kaamadhenu (mythical wish fulfilling cow), are in His control.ਪ੍ਰਭੂਸੁਖਾਂਦਾਸਮੁੰਦਰਹੈ, ਸੁਰਗਦੇਪੰਜੇਰੁੱਖ, ਚਿੰਤਾਮਣਿਤੇਕਾਮਧੇਨਉਸਦੇਵੱਸਵਿਚਹਨ,
سُکھ ساگرُ سُرتر چِنّتامنِ کامدھینُ بسِ جا کے ॥
سکھ ساگر۔ آرام و آسائش کا سمندر۔ سر تر۔ کلپ ہرچھ ۔ وہ شجر سب پھل دیتا ہے ۔ چنتا من ۔ وہ منی دل کی خواہش کے مطابق مرادیں پوری رکتی ہے ۔ کام دھن۔ بہشت کی گائے ۔ جوہر خواہش پوری کرتی ہے
جو خدا آرام و آسائش کا سمندر ہے جس کے زیر طاقت واختیارات بہشت اور جنت کے پانچ شجر ہیں چنتا من اور کام دھین ہے

ਚਾਰਿਪਦਾਰਥਅਸਟਦਸਾਸਿਧਿਨਵਨਿਧਿਕਰਤਲਤਾਕੇ॥੧॥
chaar padaarath asat dasaa siDh nav niDh kar tal taa kay. ||1||
The four cardinal boons , the eighteen miraculous powers, and nine treasures of the world, are all in the palm of His hand. ||1||ਚਾਰਸ੍ਰੇਸ਼ਟਦਾਤਾਂਅਠਾਰਾਂਸਿੱਧੀਆਂਤੇਨੌਨਿਧੀਆਂਇਹਸਭਉਸੇਦੇਹੱਥਾਂਦੀਆਂਤਲੀਆਂਉੱਤੇਹਨ॥੧॥
چارِ پدارتھ اسٹ دسا سِدھِ نۄ نِدھِ کر تل تا کے ॥੧॥
چارپدارتھ ۔ دھرم۔ ارتھ ۔کام ۔مکوھ ۔ دس۔ جس کے ماتحت ہے ۔ کرنل تاکے ۔ جس کی ہتھیلی پر ہیں۔ (1)
چاروں نعمتیں دھرم ۔ ارتھ ۔ کام ۔ موکھ اٹھارا ں ۔ سدھیا اور دنیایو نو خزانے ہیں اور اس کی ہاتھوںکی ہتھیلی پر ہیں (1)
ਹਰਿਹਰਿਹਰਿਨਜਪਹਿਰਸਨਾ॥
har har har na jaapeh rasnaa.
O’ pandit, why don’t you utter God’s Name with your tongue, ਹੇਪੰਡਿਤ!) ਤੂੰਆਪਣੀਜੀਭਨਾਲਵਾਹਿਗੁਰੂਦਾਉਚਾਰਨਕਿਉਂਨਹੀਂਕਰਦਾ?
ہرِ ہرِ ہرِ ن جپہِ رسنا ॥
رسنا۔ زبان۔ اور سب تیاگ ۔ باقی سب چھوڑ دے ۔
زبان سے الہٰی حمدوچناہ کیوں نہیں کرتا
ਅਵਰਸਭਤਿਆਗਿਬਚਨਰਚਨਾ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
avar sabhti-aag bachan rachnaa. ||1|| rahaa-o.
Abandon your involvement in all other empty words. ||1||Pause||ਤੂੰਹੋਰਸਾਰੀਆਂਫੋਕੀਆਂਗੱਲਾਂਛੱਡਦੇਹ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
اۄر سبھ تِیاگِ بچن رچنا ॥੧॥ رہاءُ ॥
بچن رچنا۔ باتوں میں خیال۔ رہاؤ۔
اے انسان فضول باتیں چھوڑ کر ۔ رہاؤ۔
ਨਾਨਾਖਿਆਨਪੁਰਾਨਬੇਦਬਿਧਿਚਉਤੀਸਅਖਰਮਾਂਹੀ॥naanaa khi-aan puraan bayd biDh cha-utees akhar maaNhee.The various Shaastras, Puranas, and the Vedas are made up of thirty-four letters.
ਅਨੇਕਾਂਸ਼ਾਸਤਰ, ਪੁਰਾਣਅਤੇਬ੍ਰਹਮਾਦੇਵੇਦਚੌਂਤੀਅੱਖਰਾਂਦੇਵਿਚੋਂਰਚੇਹੋਏਹਨ।
نانا کھِیان پُران بید بِدھِ چئُتیِس اکھر ماںہیِ ॥
نانا ۔کئی قسم کے ۔ کھیان ۔ قصے کہانیاں۔پران۔ وید بدھ ۔ ویدوں کے بتائے ہوئے طریقے ۔جو تیس اکھر ۔ چوتیس لفظ ۔ مانہی ۔میں۔
پرانوںکے بیشمار قیصے کہانیاں ویدوں کے بتائے ہوئے طور طریقے اور شرع اور کتابیں صرف خیالات کا اظہار ہے ۔
ਬਿਆਸਬਿਚਾਰਿਕਹਿਓਪਰਮਾਰਥੁਰਾਮਨਾਮਸਰਿਨਾਹੀ॥੨॥
bi-aas bichaar kahi-o parmaarath raam naam sar naahee. ||2||
After deep contemplation, Sage Vyaas spoke of the supreme objective;nothing equals tothe merits of meditation on God’s Name. ||2||
ਵਿਆਸਰਿਸ਼ੀਨੇਸੋਚਵਿਚਾਰਕੇਇਹਧਰਮ-ਤੱਤਦੱਸਿਆਹੈਕਿਹਰੀਦੇਨਾਮਦਾਸਿਮਰਨਕਰਨਦੇਬਰਾਬਰਕੋਈਸ਼ੈਨਹੀਂ॥੨॥
بِیاس بِچارِ کہِئو پرمارتھُ رام نام سرِ ناہیِ ॥੨॥
بیاس وچار۔ فلا سفر بیاس کے خیال۔ پرمارتھ ۔ اصل حقیقت۔ رام نام۔ الہٰینام ۔ سچ وحقیقت ۔ سرناہی ۔ سے اوپر ناہی (2)
ان مذہبی کتابوں کے الہٰی نام سچ وحقیقت کی ریاض و یاد کے برابر کوئی نہیں (2)
ਸਹਜਸਮਾਧਿਉਪਾਧਿਰਹਤਫੁਨਿਬਡੈਭਾਗਿਲਿਵਲਾਗੀ॥
sahj samaaDh upaaDh rahat fun badai bhaag liv laagee.
When through great destiny, the person whose conscience is imperceptibly attuned to God, his mind becomes free of strife. ਵੱਡੀਕਿਸਮਤਨਾਲਜਿਸਮਨੁੱਖਦੀਸੁਰਤਿਪ੍ਰਭੂ-ਚਰਨਾਂਵਿਚਜੁੜਦੀਹੈਉਸਦਾਮਨਬਖੇੜਿਆਂਤੋਂਆਜ਼ਾਦਹੋਜਾਂਦਾਹੈ।
سہج سمادھِ اُپادھِ رہت پھُنِ بڈےَ بھاگِ لِۄ لاگیِ ॥
سہج سمادھ ۔ قدرتی دھیان توجہ ۔ اپادھ ریت۔ بغیر جھگڑتے ۔ فن۔ پھر۔ وڈے بھاگ۔ بلند قیمت سے ۔ لولاگی ۔محبت ہوئی۔
اے رودیاس کہہ۔ بلند قسمت سے جس شخص کی خدا سے محبت ہوجائے اسے روحآنیسکون ملتا ہے کوئی برائی اسکے دلمیں پیدا نہیں ہوتی ۔
ਕਹਿਰਵਿਦਾਸਪ੍ਰਗਾਸੁਰਿਦੈਧਰਿਜਨਮਮਰਨਭੈਭਾਗੀ॥੩॥੪॥
kahi ravidaas pargaas ridai Dhar janam maran bhai bhaagee. ||3||4||
Ravi Das says, that person’s mind is enlightened with divine wisdom, and fear of birth and death flees away. ||3||4|| ਰਵਿਦਾਸਆਖਦਾਹੈ, ਉਹਮਨੁੱਖਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਚਾਨਣਪ੍ਰਾਪਤਕਰਦਾਹੈ, ਤੇ, ਜਨਮਮਰਨ (ਭਾਵ, ਸਾਰੀਉਮਰ) ਦੇਉਸਦੇਡਰਨਾਸਹੋਜਾਂਦੇਹਨ॥੩॥੪॥
کہِ رۄِداس پ٘رگاسُ رِدےَ دھرِ جنم مرن بھےَ بھاگیِ ॥੩॥੪॥
پرگاس روے ۔ دلمیں روشنی ۔ جنم مرن۔ موت و پیدائش ۔ ابھے بھاگی ۔ خوف ختم ہوا۔
اسکے دل میں روحانی علم کی روشنی ہوجاتی ہے پیدائش موت کا خوف مٹ جاتا ہے ۔

ਜਉਤੁਮਗਿਰਿਵਰਤਉਹਮਮੋਰਾ॥
ja-o tum girivar ta-o ham moraa.
O’ God, if You be a green hillside, then I would like to be a peacock. ਹੇਮੇਰੇਮਾਧੋ! ਜੇਤੂੰਸੋਹਣਾਜਿਹਾਪਹਾੜਬਣੇਂ, ਤਾਂਮੈਂਤੇਰਾਮੋਰਬਣਾਂਗਾ।
جءُ تُم گِرِۄر تءُ ہم مورا ॥
گرور ۔ بہاڑ (1)
اے خدا اگر تو پہاڑ بن جائے تومیں موربن جاؤں گا ۔
ਜਉਤੁਮਚੰਦਤਉਹਮਭਏਹੈਚਕੋਰਾ॥੧॥
ja-o tum chandta-o ham bha-ay hai chakoraa. ||1||
If You be the moon, then I want to be a partridge. ||1||ਜੇਤੂੰਚੰਦਬਣੇਂਤਾਂਮੈਂਤੇਰੀਚਕੋਰਬਣਾਂਗਾ॥੧॥
جءُ تُم چنّد تءُ ہم بھۓ ہےَ چکورا ॥੧॥
اگر تم چاند ہوجاؤ تو میں چکور بن جاؤں گا
ਮਾਧਵੇਤੁਮਨਤੋਰਹੁਤਉਹਮਨਹੀਤੋਰਹਿ॥
maaDhvay tum na torahu ta-o ham nahee toreh.
O’ God, if You will not break with me, then I will not break with You.ਹੇਮਾਧੋ! ਜੇਤੂੰ (ਮੇਰੇਨਾਲੋਂ) ਪਿਆਰਨਾਹਤੋੜੇਂ, ਤਾਂਮੈਂਭੀਨਹੀਂਤੋੜਾਂਗਾ;
مادھۄے تُم ن تورہُ تءُ ہم نہیِ تورہِ ॥
اے خدا اگر تو مجھ سے محبت ہ توڑ یگا تومیں بھی نہیں توڑونگا ۔
ਤੁਮਸਿਉਤੋਰਿਕਵਨਸਿਉਜੋਰਹਿ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
tum si-o tor kavan si-o joreh. ||1|| rahaa-o.
because after breaking with You, with whom would I join? ||1||Pause|| ਕਿਉਂਕਿਤੇਰੇਨਾਲੋਂਤੋੜਕੇਮੈਂਹੋਰਕਿਸਨਾਲਜੋੜਸਕਦਾਹਾਂ? ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
تُم سِءُ تورِ کۄن سِءُ جورہِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کیونکہ تم سے توڑ کے میں کس سے جوڑونگا (1)

ਜਉਤੁਮਦੀਵਰਾਤਉਹਮਬਾਤੀ॥
ja-o tum deevraa ta-o ham baatee.
If You be the lamp, then I be the wick of that lamp.ਜੇਤੂੰਸੋਹਣਾਦੀਵਾਬਣੇਂ, ਮੈਂ (ਤੇਰੀ) ਵੱਟੀਬਣਜਾਵਾਂ।
جءُ تُم دیِۄرا تءُ ہم باتیِ ॥
دیو۔دیوتا ۔ فرشتہ ۔
(1) اگر تو چراغ ہوجائے تو تیری بتی ہوجاؤں گا
ਜਉਤੁਮਤੀਰਥਤਉਹਮਜਾਤੀ॥੨॥
ja-o tum tirath ta-o ham jaatee. ||2||
If You be a sacred place of pilgrimage, then I become a pilgrim. ||2||
ਜੇਤੂੰਤੀਰਥਬਣਜਾਏਂਤਾਂਮੈਂ (ਤੇਰਾਦੀਦਾਰਕਰਨਲਈ) ਜਾਤ੍ਰੂਬਣਜਾਵਾਂਗਾ॥੨॥
جءُ تُم تیِرتھ تءُ ہم جاتیِ ॥੨॥
اگر تو زیارت گاہ ہوجائے تو زیارت کرنے والا حاجی ہوجاؤں گا تیرے دیدار کے لئے (2)