Urdu-Raw-Page-607

ਗਲਿਜੇਵੜੀਆਪੇਪਾਇਦਾਪਿਆਰਾਜਿਉਪ੍ਰਭੁਖਿੰਚੈਤਿਉਜਾਹਾ॥
gal jayvrhee aapay paa-idaa pi-aaraa ji-o parabhkhinchai ti-o jaahaa.
God Himself has put a chainaround the necks of creatures and as He pulls them, they must go in that direction..
ਪ੍ਰਭੂਆਪਹੀ (ਸਭਜੀਵਾਂਦੇ) ਗਲਵਿਚਰੱਸੀਪਾਈਰੱਖਦਾਹੈ, ਜਿਵੇਂਪ੍ਰਭੂ (ਉਸਰੱਸੀਨੂੰ) ਖਿੱਚਦਾਹੈਤਿਵੇਂਹੀਜੀਵ (ਜੀਵਨ-ਰਾਹਤੇ) ਤੁਰਦੇਹਨ।
گلِ جیۄڑیِ آپے پائِدا پِیارا جِءُ پ٘ربھُ کھِنّچےَ تِءُ جاہا
جیوڑی ۔ رسی ۔ جیؤ پرھ کھنچے ۔ جدھر کھنچتا ہے خدا۔
محبوب خود ان کی گردنوں میں زنجیریں ڈالتا ہے۔ جیسا کہ خدا نے انہیں کھینچ لیا
ਜੋਗਰਬੈਸੋਪਚਸੀਪਿਆਰੇਜਪਿਨਾਨਕਭਗਤਿਸਮਾਹਾ॥੪॥੬॥
jo garbai so pachsee pi-aaray jap naanak bhagat samaahaa. ||4||6||
O’ God, whoever indulges in self-conceit, is spiritually destroyed: O’ Nanak, whoever remembers God, merges in Him through devotional worship. ||4||6||
ਹੇਪ੍ਰਭੂ ! ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਅਹੰਕਾਰਕਰਦਾਹੈਉਹਆਤਮਕਮੌਤਸਹੇੜਲੈਂਦਾਹੈ।ਹੇਨਾਨਕ! ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਪ੍ਰਭੂਦਾਸਿਮਰਨਕਰਦਾਹੈ, ਉਹਭਗਤੀਦੁਆਰਾਪ੍ਰਭੂਵਿੱਚਸਮਾਜਾਂਦਾਹੈ॥੪॥੬॥
جو گربےَ سو پچسیِ پِیارے جپِ نانک بھگتِ سماہا ॥੪॥੬॥
جو گربھے ۔ جو غرور یا تکبرکرتاہے ۔ پچسی ۔ فناہ ہوجاتا ہے ۔ جپ ۔ ریاض۔ بھگت سماہا۔ الہٰی پیار پریم میں محو ومجذوب ہوجاتاہے ۔
جو شخص تکبر کرتا ہے اسے ہلاک کر دیا جائے گا ، پیارے! پروردگار کا دھیان کرتے ہوئے ، نانک بھکتی عبادت میں مشغول ہیں
ਸੋਰਠਿਮਃ੪ਦੁਤੁਕੇ॥
sorath mehlaa 4 dutukay.
Raag Sorath, Fourth Guru, Couplets:
سورٹھِ مਃ੪ دُتُکے ॥
ਅਨਿਕਜਨਮਵਿਛੁੜੇਦੁਖੁਪਾਇਆਮਨਮੁਖਿਕਰਮਕਰੈਅਹੰਕਾਰੀ॥
anik janam vichhurhay dukh paa-i-aa manmukh karam karai ahaNkaaree.
Separated from God for innumerable births, a self-willed person continues to suffer and remains engaged in deeds of egotism
ਅਨੇਕਾਂਜਨਮਾਂਤੋਂਪ੍ਰਭੂਨਾਲੋਂਵਿਛੁੜਿਆਹੋਇਆਮਨਮੁਖਦੁੱਖਸਹਿੰਦਾਆਉਂਦਾਹੈ,ਤੇਹੰਕਾਰਦੇਆਸਰੇਹੀਕਰਮਕਰਦਾਰਹਿੰਦਾਹੈ।
انِک جنم ۄِچھُڑے دُکھُ پائِیا منمُکھِ کرم کرےَ اہنّکاریِ ॥
انک۔ بیشمار۔ منمکھ ۔ خودی پسند۔ کرم ۔اعمال ۔ اہنکاری ۔ تکبر و غرور والے ۔
خودی پسند کی دیرینہ جدائی کی وجہ سے عذاب برداشت کرتا ہے اور تمام کام غرور اور تکبر میں کرتاہے
ਸਾਧੂਪਰਸਤਹੀਪ੍ਰਭੁਪਾਇਆਗੋਬਿਦਸਰਣਿਤੁਮਾਰੀ॥੧॥
saaDhoo parsat hee parabh paa-i-aa gobid sarantumaaree. ||1||
O’ God, upon following the Guru’s teachings, he comes to Your refuge and immediately realizes You. ||1||
ਗੁਰੂਦੇਚਰਨਛੁੰਹਦਿਆਂਹੀ, ਹੇਗੋਬਿੰਦ! ਉਹਤੇਰੀਸਰਨਆਪੈਂਦਾਹੈਤੇਉਸਨੂੰਪ੍ਰਭੂਲੱਭਪੈਂਦਾਹੈ।॥੧॥
سادھوُ پرست ہیِ پ٘ربھُ پائِیا گوبِد سرنھِ تُماریِ ॥੧॥
سادہو پرست۔ پاکدامن انسان کی چھوہ سے ۔ پربھ پایئیا ۔ الہٰی ملاپ ۔ ھاسل ہوا
مگر خدا پرست پاکدامن کی چھوہ سے الہٰی ملاپ حاصل ہو جاتا ہے اے خدا وہ تیرے زیر سیاہ ہوجاتاہے (1 )

ਗੋਬਿਦਪ੍ਰੀਤਿਲਗੀਅਤਿਪਿਆਰੀ॥
gobid pareet lagee at pi-aaree.
The Love of God seems very endearing to him.
ਪਰਮਾਤਮਾਦੀਪ੍ਰੀਤਿਉਸਨੂੰਬਹੁਤਪਿਆਰੀਲੱਗਦੀਹੈ।
گوبِد پ٘ریِتِ لگیِ اتِ پِیاریِ ॥
جب پاکدامن خد ا رسیدوں (کا) سچی صحبت و قربت نصیب ہوجائے
ਜਬਸਤਸੰਗਭਏਸਾਧੂਜਨਹਿਰਦੈਮਿਲਿਆਸਾਂਤਿਮੁਰਾਰੀ॥ਰਹਾਉ॥
jab satsang bha-ay saaDhoo jan hirdai mili-aa saaNt muraaree. rahaa-o.
When he meets with the saintly people in the holy congregation, then he realizes God in his heart, the embodiment of peace. ||Pause||
ਜਦੋਂਉਸਨੂੰਭਲੇਮਨੁੱਖਾਂਦੀਭਲੀਸੰਗਤਿਪ੍ਰਾਪਤਹੁੰਦੀਹੈ, ਉਸਨੂੰਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਸ਼ਾਂਤੀਦੇਣਵਾਲਾਪ੍ਰਭੂਆਮਿਲਦਾਹੈ॥ਰਹਾਉ॥
جب ستسنّگ بھۓ سادھوُ جن ہِردےَ مِلِیا ساںتِ مُراریِ ॥ رہاءُ ॥
ست سنگ ۔ سچاساتھ ۔ سادہوجن۔ پاکدامن خادم خدا۔ سانت ۔مراری ۔خدا۔ رہاؤ
تو اسے سکون مہیا کرنے والے خدا کا ملاپ حاصل ہوجاتاہے اور اسکے دل میں خدا سے بھاری محبت پیداہوجاتی ہے ۔ (1) رہاؤ۔

ਤੂਹਿਰਦੈਗੁਪਤੁਵਸਹਿਦਿਨੁਰਾਤੀਤੇਰਾਭਾਉਨਬੁਝਹਿਗਵਾਰੀ॥
too hirdai gupat vaseh din raatee tayraa bhaa-o na bujheh gavaaree.
O’ God, day and night You invisibly dwell in the hearts of all beings; but the foolish people do not understand how to love You.
ਹੇਪ੍ਰਭੂ! ਤੂੰਹਰਵੇਲੇਸਭਜੀਵਾਂਦੇਹਿਰਦੇਵਿਚਲੁਕਿਆਹੋਇਆਟਿਕਿਆਰਹਿੰਦਾਹੈਂ, ਮੂਰਖਮਨੁੱਖਤੇਰੇਨਾਲਪਿਆਰਕਰਨਾਨਹੀਂਸਮਝਦੇ।
توُ ہِردےَ گُپتُ ۄسہِ دِنُ راتیِ تیرا بھاءُ ن بُجھہِ گۄاریِ ॥
گپت ۔ پوشیدہ ۔ بھاو۔پیار۔ گواری ۔ جاہل۔
جاہل انسان تیری محبت کونہیں سمجھے ۔ سچے مرشد کے ملاپ سےا نسان کے دل میں خدا ظاہر ہوجاتا ہے
ਸਤਿਗੁਰੁਪੁਰਖੁਮਿਲਿਆਪ੍ਰਭੁਪ੍ਰਗਟਿਆਗੁਣਗਾਵੈਗੁਣਵੀਚਾਰੀ॥੨॥
satgur purakh mili-aa parabh pargati-aa gun gaavai gun veechaaree. ||2||
God manifests within the one whom true Guru meets; that person then sings God’s praises by reflecting on His virtues. ||2||
ਜਿਸਮਨੁੱਖਨੂੰਸਰਬ-ਵਿਆਪਕਪ੍ਰਭੂਦਾਰੂਪਗੁਰੂਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈਉਸਦੇਅੰਦਰਪ੍ਰਭੂਪਰਗਟਹੋਜਾਂਦਾਹੈ।ਉਹਮਨੁੱਖਪ੍ਰਭੂਦੇਗੁਣਾਂਵਿਚਸੁਰਤਿਜੋੜਕੇਗੁਣਗਾਂਦਾਰਹਿੰਦਾਹੈ॥੨॥
ستِگُرُ پُرکھُ مِلِیا پ٘ربھُ پ٘رگٹِیا گُنھ گاۄےَ گُنھ ۄیِچاریِ ॥੨॥
ستِگُر ہرکھ ۔ سچامرشد انسان ۔پرگٹیا۔ ظہور میں آئیا
سچے مرشد کے ملاپ سےا نسان کے دل میں خدا ظاہر ہوجاتا ہے اور وہ اپنی ہوش الہٰی اوسافمیں مرکوز کرکے الہٰی حمدوثناہ کرتا رہتا ہے (2)
ਗੁਰਮੁਖਿਪ੍ਰਗਾਸੁਭਇਆਸਾਤਿਆਈਦੁਰਮਤਿਬੁਧਿਨਿਵਾਰੀ॥
gurmukh pargaas bha-i-aa saat aa-ee durmat buDh nivaaree.
One who follows the Guru’s teachings, becomes spiritually enlightened; calmness prevails within such a person and he gets rid of his evil intellect.
ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੀਸ਼ਰਨਆਪੈਂਦਾਹੈਉਸਦੇਅੰਦਰਆਤਮਕਜੀਵਨਦਾਚਾਨਣਹੋਜਾਂਦਾਹੈ, ਉਸਦੇਅੰਦਰਠੰਢਪੈਜਾਂਦੀਹੈ, ਉਹਮਨੁੱਖਆਪਣੇਅੰਦਰੋਂਭੈੜੀਮਤਿਵਾਲੀਅਕਲਦੂਰਕਰਲੈਂਦਾਹੈ l
گُرمُکھِ پ٘رگاسُ بھئِیا ساتِ آئیِ دُرمتِ بُدھِ نِۄاریِ ॥
گورمکھ پر گاسبھیا۔ گرویا مرشدکے ذریعے ۔ پر گاس بھیا۔ روشن ہوا۔ سانت آئی۔سکونملا۔ درمت بدھ نواری ۔ بدعقلی چھوڑی
مرشد کے وسیلے سے جس کے دل میں روحانی روشنی یا سمجھ آجاتی ہے اس کے دل کو تسکین محسوس ہو تی ہے
ਆਤਮਬ੍ਰਹਮੁਚੀਨਿਸੁਖੁਪਾਇਆਸਤਸੰਗਤਿਪੁਰਖਤੁਮਾਰੀ॥੩॥
aatam barahm cheen sukh paa-i-aa satsangat purakhtumaaree. ||3||
O’ all pervading God, by joining the company of Your saints and by realizing the presence of God within, he enjoys the celestial peace. ||3||
ਹੇਸਰਬ-ਵਿਆਪਕਪ੍ਰਭੂ! ਤੇਰੀਸਾਧਸੰਗਤਿਅੰਦਰਉਹਮਨੁੱਖਆਪਣੇਅੰਦਰਪ੍ਰਭੂਨੂੰਵੱਸਦਾਪਛਾਣਕੇਆਤਮਕਸੁਖਮਾਣਦਾਹੈ॥੩॥
آتم ب٘رہمُ چیِنِ سُکھُ پائِیا ستسنّگتِ پُرکھ تُماریِ ॥੩॥
آتم برہم چین ۔ روحانی والہٰی راز کو سمجھ کر ۔ ست سنگت پرکھ ۔ سچے ساتھیوںکی صحبت و قربت (3)
اس کی بد عقلی ختم ہوجاتی ہے ۔ اسے اپنے دلمیں خدا بسنے کی پہچان سے سکون ملاتا ہے سچی صحبت و قربت پاکدامناں تیری ہی برکت سے ہے (3)
ਪੁਰਖੈਪੁਰਖੁਮਿਲਿਆਗੁਰੁਪਾਇਆਜਿਨਕਉਕਿਰਪਾਭਈਤੁਮਾਰੀ॥
purkhai purakh mili-aa gur paa-i-aa jin ka-o kirpaa bha-ee tumaaree.
One who meets the Guru and follow his teachings, realizes the all pervading God; but O’ God, the Guru meets only those who are under Your grace.
ਜਿਸਮਨੁੱਖਨੂੰਗੁਰੂਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈਉਸਮਨੁੱਖਨੂੰਸਰਬ-ਵਿਆਪਕਪਰਮਾਤਮਾਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈ।ਪਰ, ਹੇਪ੍ਰਭੂ! ਗੁਰੂਭੀਉਹਨਾਂਨੂੰਹੀਮਿਲਦਾਹੈਜਿਨ੍ਹਾਂਉਤੇਤੇਰੀਕਿਰਪਾਹੁੰਦੀਹੈ।
پُرکھےَ پُرکھُ مِلِیا گُرُ پائِیا جِن کءُ کِرپا بھئیِ تُماریِ ॥
پرکھے پرکھ ۔مراد مرشد جو ایک لائق قابلیت رکھنے والا انسان ہے تمام قوتوں والے خدا سے ملاپ حاصل ہوا۔انل ۔ جاسکا اندازہ یاتول نہ کیا جا سکے ۔
جسکا ملاپ مرشد سے ہوجاتاہے اسے الہٰی ملاپ بھی حاصل ہوجاتا ہے ۔ مرشد سے ملاپ اسیکاہوتا جس پر الہٰی رحمت وعنایت ہوتی ہے

ਨਾਨਕਅਤੁਲੁਸਹਜਸੁਖੁਪਾਇਆਅਨਦਿਨੁਜਾਗਤੁਰਹੈਬਨਵਾਰੀ॥੪॥੭॥
naanak atul sahj sukh paa-i-aa an-din jaagat rahai banvaaree. ||4||7||O’ Nanak, such a person enjoys the immeasurable celestial peace; being always attuned to God, he remains awake and alert to any evil influences. ||4||7||
ਹੇਨਾਨਕ! ਅਜੇਹਾਮਨੁੱਖਆਤਮਕਅਡੋਲਤਾਦਾਬੇਅੰਤਸੁਖਮਾਣਦਾਹੈ, ਉਹਹਰਵੇਲੇਪਰਮਾਤਮਾਦੀਯਾਦਵਿਚਲੀਨਰਹਿਕੇਵਿਕਾਰਾਂਵਲੋਂਸੁਚੇਤਰਹਿੰਦਾਹੈ॥੪॥੭॥
نانک اتُلُ سہج سُکھُ پائِیا اندِنُ جاگتُ رہےَ بنۄاریِ ॥੪॥੭॥
سہج سکھ ۔ روحانی یا ذہنی سکون ۔ اندن ۔ ہر روز۔ جاگت۔ بیدار۔ بنواری ۔ خدا۔
اےنانک ایسا انسان روحانی مستقل مزاجی کا بیشمار سکون پاتا ہے اور ہر وقت الہٰی یادمیں محوومجذوب رہ کر بدیوں اور برائیوں سے بیدار رہتاہے ۔

ਸੋਰਠਿਮਹਲਾ੪॥
sorath mehlaa 4.
Raag Sorath, Fourth Guru:

سورٹھِ مہلا ੪॥
ਹਰਿਸਿਉਪ੍ਰੀਤਿਅੰਤਰੁਮਨੁਬੇਧਿਆਹਰਿਬਿਨੁਰਹਣੁਨਜਾਈ॥
har si-o pareet antar man bayDhi-aa har bin rahan na jaa-ee.
That person, whose heart and mind are transfixed by the love for God, cannot spiritually survive without remembering Him.
ਪ੍ਰਭੂਨਾਲਪਿਆਰਦੀਰਾਹੀਂਜਿਸਮਨੁੱਖਦਾਹਿਰਦਾਜਿਸਮਨੁੱਖਦਾਮਨਵਿੱਝਜਾਂਦਾਹੈ, ਉਹਪ੍ਰਭੂਦੀਯਾਦਤੋਂਬਿਨਾਰਹਿਨਹੀਂਸਕਦਾ।
ہرِ سِءُ پ٘ریِتِ انّترُ منُ بیدھِیا ہرِ بِنُ رہنھُ ن جائیِ ॥
پریت ۔ پیار۔ انتر من بیدھیا۔ ذہن نشین ہوگیا ۔
میرا دل الہٰی پیارکی گرفت میں آگیاہے ۔ اسلئے خدا کے بغیر رہ نہیں سکتے ۔
ਜਿਉਮਛੁਲੀਬਿਨੁਨੀਰੈਬਿਨਸੈਤਿਉਨਾਮੈਬਿਨੁਮਰਿਜਾਈ॥੧॥
ji-o machhulee bin neerai binsai ti-o naamai bin mar jaa-ee. ||1||
Just as the fish dies without water, similarly that person spiritually dies without meditating on Naam. ||1||
ਜਿਵੇਂਪਾਣੀਤੋਂਬਿਨਾਮੱਛੀਮਰਜਾਂਦੀਹੈ, ਤਿਵੇਂਉਹਮਨੁੱਖਨਾਮਤੋਂਬਿਨਾਆਤਮਕਮੌਤਆਗਈਸਮਝਦਾਹੈ॥੧॥
جِءُ مچھُلیِ بِنُ نیِرےَ بِنسےَ تِءُ نامےَ بِنُ مرِ جائیِ ॥੧॥
بن نیرے ۔ بغیر پانی ۔ ونسے ۔ فوت ہوجاتی ہے ۔ نامے ۔ الہٰی نام۔ سچ و ھقیقت
۔ جیسے مچھلی پانی کے بغیر زندہ نہیں رہ سکتی ویسے انسان کی سچ اور حقیقت الہٰی نام کے بغیر روحانی واخلاقی موت ہوجاتی ہے (1)
ਮੇਰੇਪ੍ਰਭਕਿਰਪਾਜਲੁਦੇਵਹੁਹਰਿਨਾਈ॥
mayray parabh kirpaa jal dayvhu har naa-ee.
O’ my God, please bless me with the water of Your mercy and the gift of singing Your praises.
ਹੇਮੇਰੇਪ੍ਰਭੂ! (ਮੈਨੂੰਆਪਣੀ) ਮੇਹਰਦਾਜਲਦੇਹ।ਹੇਹਰੀ! ਮੈਨੂੰਆਪਣੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਦੀਦਾਤਿਦੇਹ।
میرے پ٘ربھ کِرپا جلُ دیۄہُ ہرِ نائیِ॥
کرپا۔ مہربانی۔ کرم وعنایت ۔
اے میرے پیارے خدا مجھے اپنی کرم وعنایت فرما
ਹਉਅੰਤਰਿਨਾਮੁਮੰਗਾਦਿਨੁਰਾਤੀਨਾਮੇਹੀਸਾਂਤਿਪਾਈ॥ਰਹਾਉ॥
ha-o antar naam mangaa din raatee naamay hee saaNt paa-ee. rahaa-o.
In my heart, day and night I beg for Naam, because spiritual peace can only be received through Naam. ||Pause||
ਮੈਂਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਦਿਨਰਾਤਨਾਮਮੰਗਦਾਹਾਂਕਿਉਂਕਨਾਮਵਿਚਜੁੜਿਆਂਹੀਆਤਮਕਠੰਡਪ੍ਰਾਪਤਹੋਸਕਦੀਹੈ॥ਰਹਾਉ॥

ہءُ انّترِ نامُ منّگا دِنُ راتیِ نامے ہیِ ساںتِ پائیِ ॥ رہاءُ ॥
سانت ۔ ٹھنڈک ۔ سکون ۔ راحت۔ رہاؤ۔
اپنےنام سچ و حقیقت کا پانی عنایت کر میرا دل روز و شب تیرانام یعنی سچ وحقیقت چاہتا ہے ۔ کیونکہ سچ و حقیقت سے ہی سکون ملتا ہے ۔ رہاو۔
ਜਿਉਚਾਤ੍ਰਿਕੁਜਲਬਿਨੁਬਿਲਲਾਵੈਬਿਨੁਜਲਪਿਆਸਨਜਾਈ॥
ji-o chaatrik jal bin billaavai bin jal pi-aas na jaa-ee.
Just as the song-bird cries without the rain water, its thirst cannot be quenched without a drop of rain water.
ਜਿਵੇਂਵਰਖਾ-ਜਲਤੋਂਬਿਨਾਪਪੀਹਾਵਿਲਕਦਾਹੈ, ਵਰਖਾਦੀਬੂੰਦਤੋਂਬਿਨਾਉਸਦੀਤ੍ਰੇਹਨਹੀਂਮਿਟਦੀ,
جِءُ چات٘رِکُ جل بِنُ بِللاۄےَ بِنُ جل پِیاس ن جائیِ ॥
جل۔ آسمانیبودجسے
جسے سارنگ چا ترک یا پپیہا آسمانی بوند کے لئے آہ وزاری کرتاہے ۔
ਗੁਰਮੁਖਿਜਲੁਪਾਵੈਸੁਖਸਹਜੇਹਰਿਆਭਾਇਸੁਭਾਈ॥੨॥
gurmukh jal paavai sukh sehjay hari-aa bhaa-ay subhaa-ee. ||2||
similarly, a Guru’s follower enjoys spiritual peace and intuitively blossoms with divine love upon receiving the water of Naam. ||2||
ਤਿਵੇਂਗੁਰਾਂਦੇਰਾਹੀਂਈਸ਼ਵਰੀਅਨੰਦਦਾਪਾਣੀਪ੍ਰਾਪਤਹੁੰਦਾਹੈਅਤੇਬੰਦਾਪ੍ਰਭੂਦੀਪ੍ਰੀਤਨਾਲਸੁਖੈਨਹੀਸਰਸਬਜ਼ਹੋਜਾਂਦਾਹੈ।॥੨॥
گُرمُکھِ جلُ پاۄےَ سُکھ سہجے ہرِیا بھاءِ سُبھائیِ ॥੨॥
گورمکھ ۔مرشدکے وسیلے سے ۔ جل۔ آسمانیبودجسے ۔
جب وہ روحانی سکون میں روحانی سکون دینے والا الہٰی نام کا آب حیات حاصل کرتاہے (2)
ਮਨਮੁਖਭੂਖੇਦਹਦਿਸਡੋਲਹਿਬਿਨੁਨਾਵੈਦੁਖੁਪਾਈ॥
manmukhbhookhay dah dis doleh bin naavai dukh paa-ee.
The self-willed people, hungry for worldly wealth, wander everywhere and without meditating on Naam, they endure sorrow.
ਮਨਮੁਖਮਾਇਆਦੀਭੁੱਖਦੇਮਾਰੇਹੋਏਦਸੀਂਪਾਸੀਂਡੋਲਦੇਫਿਰਦੇਹਨ।ਨਾਮਤੋਂਖੁੰਝਕੇਉਹਦੁੱਖਪਾਂਉਂਦੇਹਨ।
منمُکھ بھوُکھے دہ دِس ڈولہِ بِنُ ناۄےَ دُکھُ پائیِ ॥
خودی پسند ہر طرف دنیاوی سرمائے کی بھوک پیاس میں دوڑ دھوپ کرتاہے اور الہٰی نام سے لا پرواہ ہوکر عذاب برداشت کرتاہے

ਜਨਮਿਮਰੈਫਿਰਿਜੋਨੀਆਵੈਦਰਗਹਿਮਿਲੈਸਜਾਈ॥੩॥
janam marai fir jonee aavai dargahi milai sajaa-ee. ||3||
They are born and die and then again fall into the cycle of birth and death and receive punishment in God’s presence. ||3||
ਉਹਜੰਮਕੇਤੇਮਰਦੇਹਨ, ਮੁੜਮੁੜਜੂਨਾਂਵਿਚਵਿੱਚਪੈਂਦੇਹਨ , ਪ੍ਰਭੂਦੀਦਰਗਾਹਵਿਚਉਨ੍ਹਾਂਨੂੰਸਜ਼ਾਮਿਲਦੀਹੈ॥੩॥
جنمِ مرےَ پھِرِ جونیِ آۄےَ درگہ مِلےَ سجائیِ ॥੩॥
تنا سک یا اواگون میں پڑا رہتا ہے اور بارگاہ الہٰی میں سزا پاتاہے (3)

ਕ੍ਰਿਪਾਕਰਹਿਤਾਹਰਿਗੁਣਗਾਵਹਹਰਿਰਸੁਅੰਤਰਿਪਾਈ॥
kirpaa karahi taa har gun gaavah har ras antar paa-ee.
O’ God, if You bestow mercy, then we can sing Your praises, and can enshrine the nectar of God’s Name in our heart.
ਹੇਹਰੀ! ਜੇਤੂੰਮੇਹਰਕਰੇਂ, ਤਾਂਹੀਅਸੀਂਜੀਵਤੇਰੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਦੇਗੀਤਗਾਸਕਦੇਹਾਂ।ਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਹਰਿ-ਨਾਮਦਾਸੁਆਦਅਨੁਭਵਕਰਸਕਦੇਹਾਂ।
ک٘رِپا کرہِ تا ہرِ گُنھ گاۄہ ہرِ رسُ انّترِ پائیِ ॥
ہر رس۔ الہٰی لطف ومزہ ۔ ترسنا۔ خواہشات کی پیاس ۔ سبد ۔کلام۔ واعظ ۔ سبق ۔پندونصائح ۔
اگر الہٰی کرم و عنایت و رحمت ہو تبھی الہٰی حمدوثناہ ہو سکتی ہے ۔ تبھی دل میں الہٰی نام سچ وحقیقت کے لطف و مزے کا احساس ہو سکتا ہے ۔
ਨਾਨਕਦੀਨਦਇਆਲਭਏਹੈਤ੍ਰਿਸਨਾਸਬਦਿਬੁਝਾਈ॥੪॥੮॥
naanak deen da-i-aal bha-ay hai tarisnaa sabad bujhaa-ee. ||4||8||
O’ Nanak , one on whom the merciful God is pleased, all his yearning for worldly riches and power are quenched through the Guru’s word. ||4||8||
ਹੇਨਾਨਕ! ਦੀਨਾਂਉਤੇਦਇਆਕਰਨਵਾਲਾਪ੍ਰਭੂਜਿਸਮਨੁੱਖਉੱਤੇਤ੍ਰੁੱਠਦਾਹੈ, ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਉਸਦੀ (ਮਾਇਆਦੀ) ਤ੍ਰੇਹਬੁਝਾਦੇਂਦਾਹੈ॥੪॥੮॥
نانک دیِن دئِیال بھۓ ہےَ ت٘رِسنا سبدِ بُجھائیِ ॥੪॥੮॥
اے نانک۔ جس انسان پر خدا کرم فرمائی کرتا ہے جو غریبوں اور ناتوانوں پر مہربانی کرنے والا ہے اس کی کلام مرشدکی ذریعےد نیاوی دولت کی خواہشات مٹا دیتا ہے ۔
ਸੋਰਠਿਮਹਲਾ੪ਪੰਚਪਦਾ॥
sorath mehlaa 4 panchpadaa.
Raag Sorath, Fourth Guru, Five liners:
سورٹھِ مہلا ੪ پنّچپدا ॥
ਅਚਰੁਚਰੈਤਾਸਿਧਿਹੋਈਸਿਧੀਤੇਬੁਧਿਪਾਈ॥
achar charai taa siDh ho-ee siDhee tay buDh paa-ee.
When one conquers the unconquerable mind, then one attains spiritual perfection and through this perfection he receives divine wisdom.
ਜਦੋਂਮਨੁੱਖਅਜਿੱਤਮਨਨੂੰਜਿੱਤਲੈਂਦਾਹੈ, ਤਦੋਂਆਤਮਕਜੀਵਨਵਿਚਕਾਮਯਾਬੀਹੋਜਾਂਦੀਹੈ, ਇਸਕਾਮਯਾਬੀਤੋਂਅਕਲਹਾਸਲਹੋਜਾਂਦੀਹੈ,
اچرُ چرےَ تا سِدھِ ہوئیِ سِدھیِ تے بُدھِ پائیِ ॥
اچر چرے ۔ جوشے کمائی نہیں جا سکتی کھائے ۔ تاسدھ ۔کامیابی ۔ سدھی تے بدھ پائی۔جب کامیابی حاصل
جب کوئی ناقابل شکست ذہن کو فتح کرتا ہے تو پھر روحانی کمال حاصل ہوتا ہے اور اسی کمال کے ذریعہ اسے الہی حکمت حاصل ہوتی ہے
ਪ੍ਰੇਮਕੇਸਰਲਾਗੇਤਨਭੀਤਰਿਤਾਭ੍ਰਮੁਕਾਟਿਆਜਾਈ॥੧॥
paraym kay sar laagay tan bheetar taa bharam kaati-aa jaa-ee. ||1||
When one is totally imbued in God’s love, as if the arrows of God’s love have pierced his body, then his mind’s doubt is eradicated. ||1||
ਜਦੋਂਪ੍ਰਭੂਦੇਪਿਆਰਦੇਤੀਰਇਸਦੇਹਿਰਦੇਵਿਚਵਿੱਝਜਾਂਦੇਹਨ, ਤਦੋਂਇਸਦੇਮਨਦੀਭਟਕਣਾਸਦਾਲਈਕੱਟੀਜਾਂਦੀਹੈ॥੧॥
پ٘ریم کے سر لاگے تن بھیِترِ تا بھ٘رمُ کاٹِیا جائیِ ॥੧॥
سر۔ تیر ۔ بھرم۔ وہم و گمان
یہ زندگی کی جدو جہد میں عظیم کامیابی ہے اورکامیابی سےعقل و ہوش وسمجھ آتی ہے اور جب الہٰی عشق کے تیروں سے نفسانی وہم وگمان مٹ جاتے ہیں (1)

ਮੇਰੇਗੋਬਿਦਅਪੁਨੇਜਨਕਉਦੇਹਿਵਡਿਆਈ॥
mayray gobid apunay jan ka-o deh vadi-aa-ee.
O’ my God of the universe, bestow this honor on me, Your devotee,
ਹੇਮੇਰੇਗੋਬਿੰਦ! (ਮੈਨੂੰ) ਆਪਣੇਦਾਸਨੂੰ (ਇਹ) ਇੱਜ਼ਤਬਖ਼ਸ਼,
میرے گوبِد اپُنے جن کءُ دیہِ ۄڈِیائیِ ॥
جن۔ خادم۔ خدمتگار ۔ وڈیائی ۔ عظمت وشہرت ۔
اے میرے کائنات کے خدا ، یہ تعظیم مجھے ، اپنے عقیدت مند کو عطا فرما
ਗੁਰਮਤਿਰਾਮਨਾਮੁਪਰਗਾਸਹੁਸਦਾਰਹਹੁਸਰਣਾਈ॥ਰਹਾਉ॥
gurmat raam naam pargaasahu sadaa rahhu sarnaa-ee. rahaa-o.
and enlighten me with Your Name through the Guru’s teachings; that I may dwell forever in Your refuge. ||Pause||
ਗੁਰੂਦੀਮਤਿਦੀਰਾਹੀਂਮੇਰੇਅੰਦਰਆਪਣੇਨਾਮਦਾਪ੍ਰਕਾਸ਼ਕਰ , ਤਾਂਜੋਮੈਂਹਮੇਸ਼ਾਂਤੇਰੀਸ਼ਰਣਵਿੱਚਵਸਾਂ॥ਰਹਾਉ॥
گُرمتِ رام نامُ پرگاسہُ سدا رہہُ سرنھائیِ ॥ رہاءُ ॥
گرمت۔ سبق مرشد۔ واعظ ۔ پر گاس ہو۔ روشن کرؤ۔ رہاؤ۔
سبق مرشد سے الہٰی نام سچ وحقیقت مجھ پر روشن کر دے تاکہ ہمیشہ تیرے زیر سایہ رہوں۔ رہاؤ۔
ਇਹੁਸੰਸਾਰੁਸਭੁਆਵਣਜਾਣਾਮਨਮੂਰਖਚੇਤਿਅਜਾਣਾ॥
ih sansaar sabh aavan jaanaa man moorakh chayt ajaanaa.
O’ my ignorant and foolish mind, the worldly attachment is the cause of the cycle of birth and death; always remember God to escape from it.
ਹੇਮੂਰਖਅੰਞਾਣਮਨ! ਇਹਜਗਤਦਾਮੋਹਜਨਮਮਰਨਦਾਕਾਰਨਹੈਇਸਤੋਂਬਚਣਲਈਪ੍ਰਭੂਦਾਨਾਮਸਿਮਰਦਾਰਹੁ।
اِہُ سنّسارُ سبھُ آۄنھ جانھا من موُرکھ چیتِ اجانھا ॥
اجانا ۔ نادانستہ ۔ بے سمجھ
اے بیوقوف دل یہ عالم ایک آمدورفت ہے یہ بات یاد رکھ ۔
ਹਰਿਜੀਉਕ੍ਰਿਪਾਕਰਹੁਗੁਰੁਮੇਲਹੁਤਾਹਰਿਨਾਮਿਸਮਾਣਾ॥੨॥
har jee-o kirpaa karahu gur maylhu taa har naam samaanaa. ||2||
O’ reverend God, bestow mercy and unite me with the Guru, only then I can get absorbed in Your Name. ||2|
ਹੇਹਰੀ! ਮੇਹਰਕਰ, ਮੈਨੂੰਗੁਰੂਮਿਲਾ, ਤਦੋਂਹੀਤੇਰੇਨਾਮਵਿਚਲੀਨਤਾਹੋਸਕਦੀਹੈ॥੨॥
ہرِ جیِءُ ک٘رِپا کرہُ گُرُ میلہُ تا ہرِ نامِ سمانھا ॥੨॥
ہاے خدا کرم وعنایت فرما مجھے مرشد کے ملاپ کا شرف حاصل ہوجائے تاکہ الہٰی نام سچ و حقیقت میں محو و مجذوب رہوں (2)
ਜਿਸਕੀਵਥੁਸੋਈਪ੍ਰਭੁਜਾਣੈਜਿਸਨੋਦੇਇਸੁਪਾਏ॥
jis kee vath so-ee parabh jaanai jis no day-ay so paa-ay. Only God, to whom this wealth of Naam belongs, knows its worth; to whom God gives this gift of Naam, he alone receives it.
ਉਹਜਿਸਦੀਵਸਤੂਇਹਨਾਮਹੈ।ਕੇਵਲਉਹਪ੍ਰਭੂਹੀਇਸਨੂੰਜਾਣਦਾਹੈ।ਜਿਸਨੂੰਉਹਦਿੰਦਾਹੈਉਹੀਉਸਨੂੰਪਾਉਂਦਾਹੈ।
جِس کیِ ۄتھُ سوئیِ پ٘ربھُ جانھےَ جِس نو دےءِ سُ پاۓ ॥
وتھ ۔ اشیا۔ بیش قیمت شے ۔
اسے ہی ملتا ہے یہ انکوہی شے جو انسانی رسائی سے نہایت بلند ترین ہے اور بینا سے بعید ہے

ਵਸਤੁਅਨੂਪਅਤਿਅਗਮਅਗੋਚਰਗੁਰੁਪੂਰਾਅਲਖੁਲਖਾਏ॥੩॥
vasat anoop at agam agochar gur pooraa alakh lakhaa-ay. ||3|| So beautiful, unapproachable and incomprehensible is this wealth of Naam; only the perfect Guru can help to understand this unexplainable wealth. ||3||
ਪਰਮਸੁੰਦਰ, ਪਹੁੰਚਤੋਂਪਰੇਅਤੇਸੋਚਸਮਝਤੋਂਉਚੇਰੀਹੈ, ਇਹਨਾਮਦੀਵਸਤੂ।ਪੂਰਨਗੁਰਾਂਦੇਰਾਹੀਂਇਸਗਿਆਤਤੋਂਪਰੇਵਸਤੂਨੂੰਜਾਣਿਆਜਾਂਦਾਹੈ॥੩॥
ۄستُ انوُپ اتِ اگم اگوچر گُرُ پوُرا الکھُ لکھاۓ ॥੩॥
وست۔ انوپ۔انوکھی شے ۔ ات اگم ۔ انسانی رسائی سے نہایت بلند۔ اگوچر۔ بیان سے باہر ۔ الکھ ۔ جو سمجھ سے بعید ہو۔ لکھائے ۔سمجھائے
یہ انوکھی شے جو انسانی رسائی سے نہایت بلند تریین ہے اور بینا سے بعید ہے کامل مرشد اس نہ سمجھ آنے والی کو سمجھاتا ہے (3)
ਜਿਨਿਇਹਚਾਖੀਸੋਈਜਾਣੈਗੂੰਗੇਕੀਮਿਠਿਆਈ॥
jin ih chaakhee so-ee jaanai goongay kee mithi-aa-ee.
Only the one who has tasted the nectar of Naam, knows it taste but cannot describe it; just like a mute who tastes the candy, but cannot speak of it.
ਜਿਸਮਨੁੱਖਨੇਇਹਨਾਮ-ਵਸਤੁਚੱਖੀਹੈਇਸਦਾਸੁਆਦਉਹੀਜਾਣਦਾਹੈ, ਉਹਬਿਆਨਨਹੀਂਕਰਸਕਦਾ, ਜਿਵੇਂਗੁੰਗਾਖਾਧੀਮਿਠਿਆਈਦਾਸੁਆਦਦੱਸਨਹੀਂਸਕਦਾ।
جِنِ اِہ چاکھیِ سوئیِ جانھےَ گوُنّگے کیِ مِٹھِیائیِ ॥
چاکھی سوئی جانے ۔ جس نے اسکا لطف اٹھا یا وہ سمجھتا ہے ۔ گونگے کی مٹھیائی ۔ جیسے گونگا مٹھیائی کھا کر اس کی لذت تو محسوس کرتا ہے مگر بتا نہیں سکتا۔
۔ جسنے اسکا مزہ چکھا لطف اٹھائیا ہے وہی اس کے لطف کوجانتا ہے اگر کوئی اس قیمتی اشیا کو چھپاے تو چھپ نہیں سکتی ۔ (4)