Urdu-Raw-Page-601

ਸੋਰਠਿਮਹਲਾ੩॥
sorath mehlaa 3.
Raag Sorath, Third Guru:
سورٹھِ مہلا ੩॥
ਹਰਿਜੀਉਤੁਧੁਨੋਸਦਾਸਾਲਾਹੀਪਿਆਰੇਜਿਚਰੁਘਟਅੰਤਰਿਹੈਸਾਸਾ॥
har jee-o tuDh no sadaa saalaahee pi-aaray jichar ghat antar hai saasaa.
O’ reverend God, bless me that I may always praise You as long as there is breath in my body.
ਹੇਪ੍ਰਭੂਜੀ! (ਮੇਹਰਕਰ) ਜਿਤਨਾਚਿਰਮੇਰੇਸਰੀਰਵਿਚਜਿੰਦਹੈ, ਮੈਂਸਦਾਤੇਰੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਕਰਦਾਰਹਾਂ।

ہرِ جیِءُ تُدھُ نو سدا سالاہیِ پِیارے جِچرُ گھٹ انّترِ ہےَ ساسا ॥
حچر۔ جبتک ۔ گھٹ انتر ۔ دلمیں۔ کھن ۔ ذرا سی دیر ۔
اے خدا جب تک میں زندہ ہوں اور سانس باقی ہیں میں تیری صفت صلاح کرتا رہوں
ਇਕੁਪਲੁਖਿਨੁਵਿਸਰਹਿਤੂਸੁਆਮੀਜਾਣਉਬਰਸਪਚਾਸਾ॥
ik pal khin visrahi too su-aamee jaana-o baras pachaasaa.
O’ God, even if You are forsaken for a moment, I deem it as if fifty years have passed.
ਹੇਪ੍ਰਭੂ! ਜੇਤੂੰਮੈਥੋਂਇਕਪਲ-ਭਰਜਾਂਇਕਛਿਨ-ਭਰਵੀਵਿੱਸਰਦਾਹੈਂ, ਮੈਂਉਹਵਕਤਪੰਜਾਹਸਾਲਬੀਤਗਏਸਮਝਦਾਹਾਂ।

اِکُ پلُ کھِنُ ۄِسرہِ توُ سُیامیِ جانھءُ برس پچاسا ॥
کھن ۔ ذرا سی دیر ۔
اگر تو مجھے پل بھر کیا تھوڑے سے وقفے کے لئے بھولے تو مجھے پچاس سال جتنا عرصہ معلو م ہوتا ہے ۔
ਹਮਮੂੜਮੁਗਧਸਦਾਸੇਭਾਈਗੁਰਕੈਸਬਦਿਪ੍ਰਗਾਸਾ॥੧॥
ham moorh mugaDh sadaa say bhaa-ee gur kai sabad pargaasaa. ||1||
O’ my brothers, forever we have been ignorant fools; but now, through the Guru’s word, the divine wisdom has become manifest in us. ||1||
ਹੇਭਾਈ! ਅਸੀਂਸਦਾਤੋਂਮੂਰਖਅੰਞਾਣਤੁਰੇਆਰਹੇਸਾਂ, ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੁਆਰਾਗਿਆਨਦਾਚਾਨਣਹੋਇਆਹੈ॥੧॥

ہم موُڑ مُگدھ سدا سے بھائیِ گُر کےَ سبدِ پ٘رگاسا ॥੧॥
موڑ مگدھ سدا سے ۔ نادان جاہل ہمیشہ سے ۔ گر کے سبد ۔ پرگاسا۔ کلام مرشد کے ذیرعے علم کی روشنی آئی
ہم پہلے سے ہی بے سمجھ چلے آرہے ہیں کلام و سبق مرشد سے روحانی علم سے ذہن روشن ہوا ہے

ਹਰਿਜੀਉਤੁਮਆਪੇਦੇਹੁਬੁਝਾਈ॥
har jee-o tum aapay dayh bujhaa-ee.
O’ reverend God, You Yourself bestow me the understanding to remember You.
ਹੇਪ੍ਰਭੂਜੀ! ਤੂੰਆਪਹੀਆਪਣਾਨਾਮਜਪਣਦੀਮੈਨੂੰਸਮਝਬਖ਼ਸ਼।

ہرِ جیِءُ تُم آپے دیہُ بُجھائیِ ॥
بجھائی ۔ سمجھ ۔
اے خدا آپ خود ہی مجھے یاد رکھنے کی سمجھ عطا کرتے ہو۔
ਹਰਿਜੀਉਤੁਧੁਵਿਟਹੁਵਾਰਿਆਸਦਹੀਤੇਰੇਨਾਮਵਿਟਹੁਬਲਿਜਾਈ॥ਰਹਾਉ॥
har jee-o tuDh vitahu vaari-aa sad hee tayray naam vitahu bal jaa-ee. rahaa-o.
O’ reverend God, I am forever dedicated to You; yes, I am dedicated and devoted to Your Name. ||Pause||
ਹੇਪ੍ਰਭੂਜੀ! ਮੈਂਤੈਥੋਂਸਦਾਸਦਕੇਜਾਵਾਂ, ਮੈਂਤੇਰੇਨਾਮਤੋਂਕੁਰਬਾਨਜਾਵਾਂ॥ਰਹਾਉ॥

ہرِ جیِءُ تُدھُ ۄِٹہُ ۄارِیا سد ہیِ تیرے نام ۄِٹہُ بلِ جائیِ ॥ رہاءُ ॥
تدھ وٹہوواریا۔ تجھ پر قربان ہوں۔ نام وٹہو یکجائی ۔ تیرے نام سچ و حقیقت پر قربان ۔
کلام سے ہی دل وجان اور زندگی پاک ہوکر خدا دل میں بسا۔

ਹਮਸਬਦਿਮੁਏਸਬਦਿਮਾਰਿਜੀਵਾਲੇਭਾਈਸਬਦੇਹੀਮੁਕਤਿਪਾਈ॥
ham sabad mu-ay sabad maar jeevaalay bhaa-ee sabday hee mukat paa-ee.
O’ brother, it is through the Guru’s word that we can eradicate our ego; through it the Guru rejuvenates us spiritually and we receive liberation from the vices.
ਹੇਭਾਈ! ਅਸੀਂਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਆਪਾਮਾਰਸਕਦੇਹਾਂ, ਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਹੀਵਿਕਾਰਾਂਵਲੋਂਮਨਮਾਰਕੇ (ਗੁਰੂ) ਆਤਮਕਜੀਵਨਦੇਂਦਾਹੈਅਤੇਸ਼ਬਦਦੀਦੇਰਾਹੀਂਹੀਵਿਕਾਰਾਂਵਲੋਂਖ਼ਲਾਸੀਹਾਸਲਹੁੰਦੀਹੈ।

ہم سبدِ مُۓ سبدِ مارِ جیِۄالے بھائیِ سبدے ہیِ مُکتِ پائیِ ॥
میں کلام شبد میں فوت ہوا ہوں ، اورشبد کے ذریعہ میں زندہ رہتے ہوئے ہی مر گیا ہوں ، اے بہن بھائی! شبد کے ذریعہ میں آزاد ہوا ہوں۔
ਸਬਦੇਮਨੁਤਨੁਨਿਰਮਲੁਹੋਆਹਰਿਵਸਿਆਮਨਿਆਈ॥
sabday man tan nirmal ho-aa har vasi-aa man aa-ee.
Our mind and heart becomes immaculate by attuning to the Guru’s word, and we realize the presence of God within us.
ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਵਿਚਜੁੜਿਆਂਹੀਮਨਪਵਿਤ੍ਰਹੁੰਦਾਹੈ, ਸਰੀਰਪਵਿਤ੍ਰਹੁੰਦਾਹੈ, ਅਤੇਪਰਮਾਤਮਾਅੰਦਰਆਵੱਸਦਾਹੈ।

سبدے منُ تنُ نِرملُ ہویا ہرِ ۄسِیا منِ آئیِ ॥
نرمل۔ پاک ۔
کلام سے ہی دل وجان اور زندگی پاک ہوکر خدا دل میں بسا۔
ਸਬਦੁਗੁਰਦਾਤਾਜਿਤੁਮਨੁਰਾਤਾਹਰਿਸਿਉਰਹਿਆਸਮਾਈ॥੨॥
sabad gur daataa jit man raataa har si-o rahi-aa samaa-ee. ||2||

The Guru’s word is the bestower of Naam; when mind is imbued with it, then one remains merged in God. ||2||
ਗੁਰੂਦਾਸ਼ਬਦਹੀਨਾਮਦੀਦਾਤਿਦੇਣਵਾਲਾਹੈ, ਜਦੋਂਸ਼ਬਦਵਿਚਮਨਰੰਗਿਆਜਾਂਦਾਹੈਤਾਂਪਰਮਾਤਮਾਵਿਚਲੀਨਹੋਜਾਂਦਾਹੈ॥੨॥

سبدُ گُر داتا جِتُ منُ راتا ہرِ سِءُ رہِیا سمائیِ ॥੨॥
سبد گر ۔ داتا ۔ کلام دینے والا ۔ سخی
کلام سبق و واعظ دینے وال سخی جن مین دل میں محو ہو گیا ہے ۔

ਸਬਦੁਨਜਾਣਹਿਸੇਅੰਨੇਬੋਲੇਸੇਕਿਤੁਆਏਸੰਸਾਰਾ॥
sabad na jaaneh say annay bolay say kit aa-ay sansaaraa.
Those who do not understand the Guru’s word are spiritually blind and deaf; why did they come into the world?
ਜੇਹੜੇਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਨਾਲਸਾਂਝਨਹੀਂਪਾਂਦੇਉਹਆਤਮਕਜੀਵਨਵਲੋਂਅੰਨ੍ਹੇਬੋਲੇਹਨ,ਉਹਕਿਸਵਾਸਤੇਸੰਸਾਰਵਿੱਚਆਏ ?

سبدُ ن جانھہِ سے انّنے بولے سے کِتُ آۓ سنّسارا ॥
کت ۔ کیوں۔ بسٹا ۔گندگی ۔ مگدھ غبار۔ نہایت جاہل۔
مرشد کی بات نہ سمجھنے والے روحانی طور پر اندھے اور بہرے ہیں وہ اس دنیا میں آئے ہی کیوں؟
ਹਰਿਰਸੁਨਪਾਇਆਬਿਰਥਾਜਨਮੁਗਵਾਇਆਜੰਮਹਿਵਾਰੋਵਾਰਾ॥
har ras na paa-i-aa birthaa janam gavaa-i-aa jameh vaaro vaaraa.
They never receive the essence of God’s Name; they waste away their lives, and go through the birth and death over and over again.
ਉਹਨਾਂਨੂੰਪ੍ਰਭੂਦੇਨਾਮਦਾਸੁਆਦਨਹੀਂਆਉਂਦਾ, ਉਹਆਪਣਾਜੀਵਨਵਿਅਰਥਗਵਾਜਾਂਦੇਹਨ, ਉਹਮੁੜਮੁੜਜੰਮਦੇਮਰਦੇਰਹਿੰਦੇਹਨ।

ہرِ رسُ ن پائِیا بِرتھا جنمُ گۄائِیا جنّمہِ ۄارو ۄارا ॥
انہیں الہیی لطف حاصل نہیں ہوتا بیکار زندگی ضائع کرکے تناسخ میں پڑے رہتے ہیں
ਬਿਸਟਾਕੇਕੀੜੇਬਿਸਟਾਮਾਹਿਸਮਾਣੇਮਨਮੁਖਮੁਗਧਗੁਬਾਰਾ॥੩॥
bistaa kay keerhay bistaa maahi samaanay manmukh mugaDh gubaaraa. ||3||
Just as the worms of filth remain in the filth, similarly the foolish self-willed persons remain consumed in the darkness of ignorance. ||3||
ਜਿਵੇਂਗੰਦਦੇਕੀੜੇਗੰਦਵਿਚਹੀਟਿਕੇਰਹਿੰਦੇਹਨ, ਤਿਵੇਂਆਪਣੇਮਨਦੇਪਿੱਛੇਤੁਰਨਵਾਲੇਮੂਰਖਮਨੁੱਖਅਗਿਆਨਤਾਦੇਹਨੇਰੇਵਿਚਹੀਮਸਤਰਹਿੰਦੇਹਨ॥੩॥

بِسٹا کے کیِڑے بِسٹا ماہِ سمانھے منمُکھ مُگدھ گُبارا ॥੩॥
بسٹا ۔گندگی ۔ مگدھ غبار۔ نہایت جاہل۔
من کے مرید گندگی کے کپڑے کی مانند گندگی میں پیدا ہوکر گندگی مین ختم ہو جاتے ہیں مورکھ اور جاہل ہیں
ਆਪੇਕਰਿਵੇਖੈਮਾਰਗਿਲਾਏਭਾਈਤਿਸੁਬਿਨੁਅਵਰੁਨਕੋਈ॥
aapay kar vaykhai maarag laa-ay bhaa-ee tis bin avar na ko-ee.
O’ brother, God Himself takes care of His creation, and puts them on the right Path; there is none other besides Him, who can do that.
ਹੇਭਾਈ! ਪ੍ਰਭੂਆਪਹੀਜੀਵਾਂਨੂੰਪੈਦਾਕਰਕੇਸੰਭਾਲਕਰਦਾਹੈ, ਆਪਹੀਜੀਵਨਦੇਸਹੀਰਸਤੇਪਾਂਦਾਹੈ, ਉਸਪ੍ਰਭੂਤੋਂਬਿਨਾਹੋਰਕੋਈਨਹੀਂਜੋਜੀਵਾਂਨੂੰਰਾਹਦੱਸਸਕੇ।

آپے کرِ ۄیکھےَ مارگِ لاۓ بھائیِ تِسُ بِنُ اۄرُ ن کوئیِ ॥
آپے کر دیکھے ۔ خودی ہی پیدا کرتا ہے خود ہی نگرانی ۔مارگ لائے ۔ راہ دکھاتا ہے ۔ دھ کھیا۔ خدا کی طرف سے تحریر شدہ ۔
خود ہی پیدا کرکے نگرانی خود ہی کرتا ہے اورخود ہی راہ چلاتا ہے نہیں اس کے بغیر دوسراکوئی ۔
ਜੋਧੁਰਿਲਿਖਿਆਸੁਕੋਇਨਮੇਟੈਭਾਈਕਰਤਾਕਰੇਸੁਹੋਈ॥
joDhur likhi-aa so ko-ay na maytai bhaa-ee kartaa karay so ho-ee.

O’ brother, no one can erase that which is pre-ordained, whatever the Creator wills, comes to pass.
ਹੇਭਾਈ! ਜੋਮੁੱਢਤੋਂਲਿਖਿਆਹੋਇਆਹੈ,ਉਸਨੂੰਕੋਈਹੋਰਮਿਟਾਨਹੀਂਸਕਦਾ, ਕਰਤਾਰਜੋਕੁਝਕਰਦਾਹੈਉਹੀਹੁੰਦਾਹੈ l

جو دھُرِ لِکھِیا سُ کوءِ ن میٹےَ بھائیِ کرتا کرے سُ ہوئیِ ॥
جوپہلے سے اس کی تقدیرمیں تحریر ہے کوئی مٹا سکتا نہیں جو کرتا ہے وہی ہوتا ہے
ਨਾਨਕਨਾਮੁਵਸਿਆਮਨਅੰਤਰਿਭਾਈਅਵਰੁਨਦੂਜਾਕੋਈ॥੪॥੪॥
naanak naam vasi-aa man antar bhaa-ee avar na doojaa ko-ee. ||4||4||
O’ Nanak, the person who realizes the presence of Naam within the mind, then he does not look for anyone else. ||4||4||
ਹੇਨਾਨਕ! ਜ਼ਿਸਇਨਸਾਨਦੇਚਿੱਤਅੰਦਰਨਾਮਟਿਕਜਾਂਦਾਹੈ,ਹੇਭਾਈ! ਫੇਰਉਹਹੋਰਕਿਸੇਦੂਸਰੇਨੂੰਨਹੀਂਵੇਖਦਾ॥੪॥੪॥

نانک نامُ ۄسِیا من انّترِ بھائیِ اۄرُ ن دوُجا کوئیِ ॥੪॥੪॥
اے نانک جس کے دل میں سچا و حقیق نام بس گیا دوسرا بس سکتا نہیں۔
ਸੋਰਠਿਮਹਲਾ੩॥
sorath mehlaa 3.
Raag Sorath, Third Guru:

سورٹھِ مہلا ੩॥
ਗੁਰਮੁਖਿਭਗਤਿਕਰਹਿਪ੍ਰਭਭਾਵਹਿਅਨਦਿਨੁਨਾਮੁਵਖਾਣੇ॥
gurmukhbhagat karahi parabhbhaaveh an-din naam vakhaanay.
Those, who engage in devotional worship by following the Guru’s teachings and always lovingly remember Naam, are pleasing to God.
ਜੋਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੁਆਰਾਭਗਤੀਕਰਦੇਹਨ,ਹਰਵੇਲੇਪ੍ਰਭੂਦਾਨਾਮਸਿਮਰਦੇਹਨਉਹਪ੍ਰਭੂਨੂੰਪਿਆਰੇਲੱਗਦੇਹਨ।

گُرمُکھِ بھگتِ کرہِ پ٘ربھ بھاۄہِ اندِنُ نامُ ۄکھانھے ॥
گورمکھ ۔مرشد کے ذریعے ۔ بھگت ۔ پریم پیار۔ عشق۔ پرھ بھاویہہ۔ خدا کا پیارا ہوجاتا ہے ۔
وہ ، جو گرو کی تعلیمات پر عمل پیرا ہوکر ہمیشہ عقیدت مندانہ عبادت میں مشغول رہتے ہیں اور نام کو ہمیشہ پیار سے یاد کرتے ہیں ، خدا کو راضی کرتے ہیں۔
ਭਗਤਾਕੀਸਾਰਕਰਹਿਆਪਿਰਾਖਹਿਜੋਤੇਰੈਮਨਿਭਾਣੇ॥
bhagtaa kee saar karahi aap raakhahi jo tayrai man bhaanay.
O’ God, You cherish Your devotees and protect those who are pleasing to You.
ਹੇਪ੍ਰਭੂ! ਤੂੰਭਗਤਾਂਦੀਸੰਭਾਲਕਰਦਾਹੈਂ, ਉਹਨਾਂਦੀਰੱਖਿਆਆਪਕਰਦਾਹੈਂ, ਜਿਹੜੇਤੇਰੇਮਨਵਿਚਪਿਆਰੇਲੱਗਦੇਹਨ।

بھگتا کیِ سار کرہِ آپِ راکھہِ جو تیرےَ منِ بھانھے ॥
سار کریہہ ۔ خبر گیری ۔نگرانی کرتا ہے ۔جو تیرے من بھانے ۔ جو تیرے دل کو اچھے لگتے ہیں۔
اےخدا تو اپنے پیاریون کی خبر گیری تو خود کرتاہے اے خدا تو اوصاف بخشش کرنے والا ہے ۔
ਤੂਗੁਣਦਾਤਾਸਬਦਿਪਛਾਤਾਗੁਣਕਹਿਗੁਣੀਸਮਾਣੇ॥੧॥
too gundaataa sabad pachhaataa gun kahi gunee samaanay. ||1||
O’ God, You are the giver of virtue, You are realized through the Guru’s word; uttering Your praises, devotees remain merged with the virtuous one (God). ||1||
ਹੇਪ੍ਰਭੂ! ਤੂੰਗੁਣਬਖ਼ਸ਼ਣਵਾਲਾਹੈਂ, ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਸਿਞਾਣਿਆਜਾਂਦਾਹੈ।ਤੇਰੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਕਰਕਰਕੇਭਗਤਗੁਣਾਂਦੇਮਾਲਕ-ਪ੍ਰਭੂਵਿਚਲੀਨਰਹਿੰਦੇਹਨ॥੧॥

توُ گُنھداتا سبدِ پچھاتا گُنھ کہِ گُنھیِ سمانھے ॥੧॥
۔ گن گیہہ گنی سمانے ۔ صفت صلاح کرکے جس کی صفت صلاھکرتے ہیں۔ اس میں محو ومجذوب ہو جاتے ہیں
سبد یا کلام سے تیری پہچان اور سمجھ آتی ہے اور تیری حمدوثناہ سے اس اوصاف کے مالک میں محو ومجذوب ہوجاتا ہے انسان
ਮਨਮੇਰੇਹਰਿਜੀਉਸਦਾਸਮਾਲਿ॥
man mayray har jee-o sadaa samaal.
O’ my mind, always remember the reverend God.
ਹੇਮੇਰੇਮਨ! ਪਰਮਾਤਮਾਨੂੰਸਦਾਚੇਤੇਕਰਦਾਰਹੁ।

من میرے ہرِ جیِءُ سدا سمالِ ॥
ہر جیؤ سدا سمال ۔ خدا کو ہمیشہیاد کر ۔
اے میرے من جو ہمیشہ حمدوثناہ کرتا تھا خدانے اسے بچائیا

ਅੰਤਕਾਲਿਤੇਰਾਬੇਲੀਹੋਵੈਸਦਾਨਿਬਹੈਤੇਰੈਨਾਲਿ॥ਰਹਾਉ॥
ant kaal tayraa baylee hovai sadaa nibhai tayrai naal. rahaa-o.
At the very last moment of life, He alone would be your best friend; He shall always stand by you. ||Pause||
ਹੇਮੇਰੇਮਨ! ਪ੍ਰਭੂਨੂੰਸਦਾਚੇਤੇਕਰਦਾਰਹੁ।ਅਖ਼ੀਰਲੇਸਮੇਪ੍ਰਭੂਹੀਤੇਰਾਮਿੱਤ੍ਰਹੋਵੇਗਾ,ਪ੍ਰਭੂਸਦਾਤੇਰੇਨਾਲਨਿਬਾਹੇਗਾਰਹਾਉ॥

انّت کالِ تیرا بیلیِ ہوۄےَ سدا نِبہےَ تیرےَ نالِ ॥ رہاءُ ॥
انت کال۔ بوقت اخرت۔ بیلی ۔ دوستی ۔ مددگار۔ نیہے ۔ ساتھ دیوے ۔ رہاؤ۔ دسٹ چوکڑی ۔ بدکاری گروہ ۔
آخری وقت پر ، وہ تنہا تمہارا سب سے اچھا دوست ہوگا۔ وہ ہمیشہ آپ کے ساتھ کھڑا رہے گا۔
ਦੁਸਟਚਉਕੜੀਸਦਾਕੂੜੁਕਮਾਵਹਿਨਾਬੂਝਹਿਵੀਚਾਰੇ॥
dusat cha-ukarhee sadaa koorh kamaaveh naa boojheh veechaaray.
The gang of the evil persons always practice falsehood; they never contemplate and understand,
ਪਰ, ਹੇਭਾਈ! ਭੈੜੇਮਨੁੱਖਸਦਾਭੈੜਹੀਕਮਾਂਦੇਹਨ, ਉਹਵਿਚਾਰਕਰਕੇਸਮਝਦੇਨਹੀਂ,

دُسٹ چئُکڑیِ سدا کوُڑُ کماۄہِ نا بوُجھہِ ۄیِچارے॥
دسٹ چوکڑی ۔ بدکاری گروہ ۔ کوڑ کماویہہ۔ جھوٹے کام کرتے ہیں۔ نہ بوجھے وچارے ۔ نہ سمجھتے ہیں نہ وچتے ہیں۔
بدکاریوں کا گروہ ہمیشہ سمجھتے ہیں نہ سوچتے ہیں جھوٹی کار کرتے ہیں ۔
ਨਿੰਦਾਦੁਸਟੀਤੇਕਿਨਿਫਲੁਪਾਇਆਹਰਣਾਖਸਨਖਹਿਬਿਦਾਰੇ॥
nindaadustee tay kin fal paa-i-aa harnaakhas nakheh bidaaray.
that no one has received any reward through wickedness or slander. The king Harnakash was torn apart with the nails of Narsing (for torturing the devotee Prahlad),
ਕਿਭੈੜੀਨਿੰਦਿਆਤੋਂਕਿਸੇਨੇਕਦੇਚੰਗਾਫਲਨਹੀਂਪਾਇਆ।ਹਰਣਾਖਸ਼ (ਨੇਭਗਤਨੂੰਦੁੱਖਦਿੱਤਾ, ਤਾਂਉਹ) ਨਹੁੰਆਂਨਾਲਚੀਰਿਆਗਿਆ।

نِنّدا دُسٹیِ تے کِنِ پھلُ پائِیا ہرنھاکھس نکھہِ بِدارے ॥
نندا۔ بدگوئی ۔ دسٹی ۔ رہی ۔ نکھیہہ بدارے۔ ناخنوں سے پھاڑ ڈالا ۔ لئے ابھارے۔ بچائے
کون شریر دشمنوں کی غیبت سے پھل حاصل کرسکتا ہے؟ یاد رہے کہ ہرناکش کو آقا کے پنجوں نے توڑا تھا
ਪ੍ਰਹਿਲਾਦੁਜਨੁਸਦਹਰਿਗੁਣਗਾਵੈਹਰਿਜੀਉਲਏਉਬਾਰੇ॥੨॥
par-hilaad jan sad har gun gaavai har jee-o la-ay ubaaray. ||2||
and devotee Prahlad, who always sang God’s praises, was saved by Him.||2||
ਭਗਤਪ੍ਰਹਿਲਾਦਸਦਾਪਰਮਾਤਮਾਦੇਗੁਣਗਾਂਦਾਸੀ, ਪਰਮਾਤਮਾਨੇਉਸਨੂੰ (ਨਰਸਿੰਘਰੂਪਧਾਰਕੇ) ਬਚਾਲਿਆ॥੨॥

پ٘رہِلادُ جنُ سد ہرِ گُنھ گاۄےَ ہرِ جیِءُ لۓ اُبارے ॥੨॥
پر ہلاد جو ہمیشہ حمدوثناہ کرتا تھا خدانے اسے بچائیا
ਆਪਸਕਉਬਹੁਭਲਾਕਰਿਜਾਣਹਿਮਨਮੁਖਿਮਤਿਨਕਾਈ॥
aapas ka-o baho bhalaa kar jaaneh manmukh mat na kaa-ee.
The self-willed persons have absolutely no wisdom at all, but they consider themselves as very virtuous.
ਆਪਣੇਮਨਦੇਪਿੱਛੇਤੁਰਨਵਾਲੇਮਨੁੱਖਨੂੰਕੋਈਅਕਲ-ਸ਼ਊਰਨਹੀਂਹੁੰਦੀ, ਉਹਆਪਣੇਆਪਨੂੰਤਾਂਚੰਗਾਸਮਝਦੇਹਨ,

آپس کءُ بہُ بھلا کرِ جانھہِ منمُکھِ متِ ن کائیِ॥
آپس کو۔ اپنے آپ کو ۔ بہو بھلا۔ نہایت نیک۔ مت۔ سمجھ ۔عقل ۔
جو اپنے آپ کونہایت نیک کہلاتا ہے اور سمجھتا ہے وہ عقل و شعو ر سے خالی ہوتا ہے ۔
ਸਾਧੂਜਨਕੀਨਿੰਦਾਵਿਆਪੇਜਾਸਨਿਜਨਮੁਗਵਾਈ॥
saaDhoo jan kee nindaa vi-aapay jaasan janam gavaa-ee.
They indulge in the slander of saintly people and depart from the world, having wasted their lives.
ਉਹਨੇਕਬੰਦਿਆਂਦੀਨਿੰਦਿਆਕਰਨਵਿਚਰੁੱਝੇਰਹਿੰਦੇਹਨ, ਉਹਆਪਣਾਜੀਵਨਵਿਅਰਥਗਵਾਜਾਂਦੇਹਨ।

سادھوُ جن کیِ نِنّدا ۄِیاپے جاسنِ جنمُ گۄائیِ॥
جن ۔ خادم۔ خدمتگار۔ نندا ویاپے ۔ بدگوئی میں مشغول (
جو نیک آد میون کی بدگوئی کرتے ہیں وہ زندگی فضول ضائع کر بیٹھتے ہیں
ਰਾਮਨਾਮੁਕਦੇਚੇਤਹਿਨਾਹੀਅੰਤਿਗਏਪਛੁਤਾਈ॥੩॥
raam naam kaday cheeteh naahee ant ga-ay pachhutaa-ee. ||3||
They never meditate on God’s Name and in the end they depart from this world regretting. ||3||
ਉਹਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਕਦੇਯਾਦਨਹੀਂਕਰਦੇ, ਆਖ਼ਰਹੱਥਮਲਦੇ (ਜਗਤਤੋਂ) ਚਲੇਜਾਂਦੇਹਨ॥੩॥

رام نامُ کدے چیتہِ ناہیِ انّتِ گۓ پچھُتائیِ॥੩॥
اور خدا کو یاد نہ رکھنے کی وجہ سے آکر پچھتاتے ہوئے زندگی گنوا کر اس عالم سے رخصت ہوتے ہیں
ਸਫਲੁਜਨਮੁਭਗਤਾਕਾਕੀਤਾਗੁਰਸੇਵਾਆਪਿਲਾਏ॥
safal janam bhagtaa kaa keetaa gur sayvaa aap laa-ay.
God Himself makes the lives of His devotees successful by inspiring them to follow the Guru’s teachings.
ਪਰਮਾਤਮਾਆਪਹੀਭਗਤਾਂਦੀਜ਼ਿੰਦਗੀਕਾਮਯਾਬਬਣਾਂਦਾਹੈ, ਉਹਆਪਹੀਉਹਨਾਂਨੂੰਗੁਰੂਦੀਸੇਵਾਵਿਚਜੋੜਦਾਹੈ।

سپھلُ جنمُ بھگتا کا کیِتا گُر سیۄا آپِ لاۓ॥
اپنے پیاروں کی زندگی خدا خود کامیاب بناتا ہے اور ان کو خدمت مرشد میں لگاتا ہے ۔
ਸਬਦੇਰਾਤੇਸਹਜੇਮਾਤੇਅਨਦਿਨੁਹਰਿਗੁਣਗਾਏ॥
sabday raatay sehjay maatay an-din har gun gaa-ay.
Being imbued with the Guru’s word and remaining absorbed in a state of peace and poise, they always sing praises of God.
ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਵਿਚਰੰਗੇਰਹਿਕੇ, ਆਤਮਕਅਡੋਲਤਾਵਿਚਮਸਤਰਹਿਕੇਉਹਹਰਵੇਲੇਪ੍ਰਭੂਦੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਦੇਗੀਤਗਾਦੇਰਹਿੰਦੇਹਨ।

سبدے راتے سہجے ماتے اندِنُ ہرِ گُنھ گاۓ॥
سہجے ماتے ۔ روحانی سکون میں محو ومجذوب
وہ ہر وقت خدا کی صفت صلاح کرکے کلام مرشد میں محوومجذوب ہوکر روحانی سکون کا لطف اُٹھاتے ہیں
ਨਾਨਕਦਾਸੁਕਹੈਬੇਨੰਤੀਹਉਲਾਗਾਤਿਨਕੈਪਾਏ॥੪॥੫॥
naanakdaas kahai baynantee ha-o laagaa tin kai paa-ay. ||4||5||
Devotee Nanak submits, that I humbly engage myself in their service. ||4||5||
ਦਾਸਨਾਨਕਬੇਨਤੀਕਰਦਾਹੈ-ਮੈਂਉਹਨਾਂਦੇਚਰਨੀਂਲੱਗਦਾਹਾਂ॥੪॥੫॥

نانک داسُ کہےَ بیننّتیِ ہءُ لاگا تِن کےَ پاۓ॥੪॥੫॥
خادم نانک ۔ عرض گزارتا ہے کہ میں ان کے پاون پڑتاہوں۔
ਸੋਰਠਿਮਹਲਾ੩॥
sorath mehlaa 3.
Raag Sorath, Third Guru:

سورٹھِ مہلا ੩॥
ਸੋਸਿਖੁਸਖਾਬੰਧਪੁਹੈਭਾਈਜਿਗੁਰਕੇਭਾਣੇਵਿਚਿਆਵੈ॥
so sikh sakhaa banDhap hai bhaa-ee je gur kay bhaanay vich aavai.
He alone is a Guru’s disciple, friend and relative, who submits to the Guru’s Will.
ਹੇਭਾਈ! ਉਹੀਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦਾਸਿੱਖਹੈ, ਗੁਰੂਦਾਮਿੱਤਰਹੈ, ਗੁਰੂਦਾਰਿਸ਼ਤੇਦਾਰਹੈ, ਜੇਹੜਾਗੁਰੂਦੀਰਜ਼ਾਵਿਚਤੁਰਦਾਹੈ।

سو سِکھُ سکھا بنّدھپُ ہےَ بھائیِ جِ گُر کے بھانھے ۄِچِ آۄےَ ॥
سو۔ وہ ۔ سکھ ۔ طالب علم ۔ مرید۔ سکھا ۔ ساتھی ۔ بندھپ ۔ رشتہ دار ۔ گر کے بھانے ۔ رضائے مرشد۔ اپنے بھاے ۔
وہی انسان مرید مرشد دوست اور رشتہ دار ہے مرشد کی رضا میں رہتاہے ۔ جو اپنی مرضی کی مطابق چلتا ہے ۔
ਆਪਣੈਭਾਣੈਜੋਚਲੈਭਾਈਵਿਛੁੜਿਚੋਟਾਖਾਵੈ॥
aapnaibhaanai jo chalai bhaa-ee vichhurh chotaa khaavai.
O’ brother, one who follows his own will, gets separated from God and suffers.
ਹੇਭਾਈ, ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਆਪਣੀਮਰਜ਼ੀਅਨੁਸਾਰਤੁਰਦਾਹੈ, ਉਹਪ੍ਰਭੂਤੋਂਵਿੱਛੁੜਕੇਦੁਖਸਹਾਰਦਾਹੈ।

آپنھےَ بھانھےَ جو چلےَ بھائیِۄِچھُڑِ چوٹا کھاۄےَ ॥
اپنے بھاے ۔ اپنی مرضی مطابق ۔ وچھڑ۔ جدا ہوکر۔ چوٹا کھاوے ۔ سزا پائے
جو اپنی مرضی کی مطابق چلتا ہے ۔ وہ خد اسے جدائی پاکر عذاب پاتا ہے
ਬਿਨੁਸਤਿਗੁਰਸੁਖੁਕਦੇਨਪਾਵੈਭਾਈਫਿਰਿਫਿਰਿਪਛੋਤਾਵੈ॥੧॥
bin satgur sukh kaday na paavai bhaa-ee fir fir pachhotaavai. ||1||
O’ brother, one never receives celestial peace without following the true Guru’s teachings and regrets again and again. ||1||
ਹੇਭਾਈ! ਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਣਤੋਂਬਿਨਾਮਨੁੱਖਕਦੇਸੁਖਨਹੀਂਪਾਸਕਦਾ, ਤੇਮੁੜਮੁੜਕੇਪਛੁਤਾਂਦਾਹੈ॥੧॥

بِنُ ستِگُر سُکھُ کدے ن پاۄےَ بھائیِ پھِرِ پھِرِ پچھوتاۄےَ ॥੧॥
سچے مرشد کے بغیر کبھی آرام نہیں پاتا عذاب پاتا ہے اور باربار پچھتاتا رہتا ہے
ਹਰਿਕੇਦਾਸਸੁਹੇਲੇਭਾਈ॥
har kay daas suhaylay bhaa-ee.
O’ brothers, the devotees of God dwell in peace.
ਹੇਭਾਈ! ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਭਗਤਸੁਖੀਜੀਵਨਬਿਤੀਤਕਰਦੇਹਨ।

ہرِ کے داس سُہیلے بھائیِ॥
اے بھائی ، خدا کے بھگت سلامت رہیں۔