Urdu-Raw-Page-575

ਹਰਿ ਧਾਰਹੁ ਹਰਿ ਧਾਰਹੁ ਕਿਰਪਾ ਕਰਿ ਕਿਰਪਾ ਲੇਹੁ ਉਬਾਰੇ ਰਾਮ ॥
har Dhaarahu har Dhaarahu kirpaa kar kirpaa layho ubaaray raam.
O’ God, show mercy and save us from vices of worldly attachments.
ਹੇ ਹਰੀ ਕਿਰਪਾ ਕਰ! ਹੇ ਹਰੀ ਕਿਰਪਾ ਕਰ! (ਸਾਨੂੰ ਵਿਕਾਰਾਂ ਤੋਂ) ਬਚਾ ਲੈ।

ہرِ دھارہُ ہرِ دھارہُ کِرپا کرِ کِرپا لیہُ اُبارے رام ॥
دھارہو کر پا۔ مہربانی اپناؤ۔ لیہو ابارے ۔ بچا لو ۔
اے خدا ۔ کرم وعنایت فرما مہربانی کر بد عملوں اور برائیوں سے بچاؤ ۔

ਹਮ ਪਾਪੀ ਹਮ ਪਾਪੀ ਨਿਰਗੁਣ ਦੀਨ ਤੁਮ੍ਹ੍ਹਾਰੇ ਰਾਮ ॥
ham paapee ham paapee nirgundeen tumHaaray raam.
We are the meek sinners and are without any merit, still we belong to You.
ਅਸੀਂ ਪਾਪੀ ਹਾਂ, ਅਸੀਂ ਪਾਪੀ ਹਾਂ, ਗੁਣ-ਹੀਨ ਹਾਂ, ਆਜਿਜ਼ ਹਾਂ, (ਪਰ ਫਿਰ ਭੀ) ਤੇਰੇ ਹਾਂ।

ہم پاپیِ ہم پاپیِ نِرگُنھ دیِن تُم٘ہ٘ہارے رام ॥
نرگن ۔ بے وصف ۔ دین ۔ غریب ۔ ناتواں ۔
ہم گناہگار ہیں بے وصف اور لاچار مجبور ہیں۔ مگر آخرت تیرے ہیں تیرے زیر سایہ ہیں۔

ਹਮ ਪਾਪੀ ਨਿਰਗੁਣ ਦੀਨ ਤੁਮ੍ਹ੍ਹਾਰੇ ਹਰਿ ਦੈਆਲ ਸਰਣਾਇਆ ॥
ham paapee nirgundeen tumHaaray har dai-aal sarnaa-i-aa.
O’ God, our merciful Master, we are the worthless meek sinners of Yours and have come to Your shelter.
ਅਸੀਂ ਪਾਪੀ ਹਾਂ, ਗੁਣ-ਹੀਨ ਹਾਂ, ਆਜਿਜ਼ ਹਾਂ, (ਪਰ ਫਿਰ ਭੀ) ਤੇਰੇ ਹਾਂ; ਹੇ ਦਇਆ ਦੇ ਘਰ ਹਰੀ!

ہم پاپیِ نِرگُنھ دیِن تُم٘ہ٘ہارے ہرِ دیَیال سرنھائِیا ॥
ہر دیال ۔ رحمان الرحیم ۔ سر نائیا۔ پناہ دینے کی توفیق رکھنے والا
اے اللہ ، ہمارے مہربان آقا ، ہم آپ کے بیکار گنہگار گنہگار ہیں اور آپ کی پناہ میں آئے ہیں

ਤੂ ਦੁਖ ਭੰਜਨੁ ਸਰਬ ਸੁਖਦਾਤਾ ਹਮ ਪਾਥਰ ਤਰੇ ਤਰਾਇਆ ॥
too dukhbhanjan sarab sukh-daata ham paathar taray taraa-i-aa.
You are the destroyer of sorrows and bestower of all comforts; we, the stone-hearted sinners, can swim across and be saved only if You help us.
ਤੂੰ ਦੁੱਖਾਂ ਦਾ ਨਾਸ ਕਰਨ ਵਾਲਾ ਹੈਂ, ਤੂੰ ਸਾਰੇ ਸੁਖ ਦੇਣ ਵਾਲਾ ਹੈਂ। ਅਸੀਂ ਕਠੋਰ-ਚਿੱਤ ਹਾਂ, ਤੇਰੇ ਤਰਾਏ ਹੋਏ ਹੀ ਤਰ ਸਕਦੇ ਹਾਂ।

توُ دُکھ بھنّجنُ سرب سُکھداتا ہم پاتھر ترے ترائِیا ॥
دکھ بھنجن ۔ عذاب مٹانے والا ۔ سرب سکھداتا۔ ہر طرح کے آرام و آسائش پہنچانے والا۔ پاتھر ۔ پتھر کی مانند۔ سخت جان ۔ سخت دل ۔ ترے ترائیا۔ تیرے تارے ہوئے ترے ۔ مراد تیرے وجہ اور کرم و عنایت سے کامیاب ہوئے ۔
تو عذاب دکھ درد مٹآنے والا ہر طرح کے آرام و آسائش پہنچانے والا ہے جب کہ ہم پتھر کی مانند سخت جان سخت دل اور بیرحم تیرے کامیابی عنایت کرنے پر کامیاب ہونے والے

ਸਤਿਗੁਰ ਭੇਟਿ ਰਾਮ ਰਸੁ ਪਾਇਆ ਜਨ ਨਾਨਕ ਨਾਮਿ ਉਧਾਰੇ ॥
satgur bhayt raam ras paa-i-aa jan naanak naam uDhaaray.
O’ Nanak, upon meeting the Guru, those who have relished God’s Name, have been saved from drowning in the ocean of vices.
ਹੇ ਨਾਨਕ! ਗੁਰੂ ਨੂੰ ਮਿਲ ਕੇ ਜਿਨ੍ਹਾਂ ਨੇ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਨਾਮ ਦਾ ਸੁਆਦ ਚੱਖਿਆ ਹੈ, ਉਹਨਾਂ ਨੂੰ ਹਰਿ-ਨਾਮ ਨੇ (ਵਿਕਾਰਾਂ ਵਿਚ ਡੁਬਦਿਆਂ ਨੂੰ) ਬਚਾ ਲਿਆ ਹੈ।

ستِگُر بھیٹِ رام رسُ پائِیا جن نانک نامِ اُدھارے ॥
ستگر بھیٹ ۔ سچے مرشد کے ملاپ سے ۔ رام رس۔ الہٰی لطف الہٰی لذت۔ نام ادھارے نام یعنی سچ و حقیقت سے کامیابی پائی ۔
۔سچے مرشد کے ملاپ سے الہٰی لطف کا مزہ چکھا اے خادم نانک نام الہٰی نام بچائیا بدیوں اور برائیوں سے
ਹਰਿ ਧਾਰਹੁ ਹਰਿ ਧਾਰਹੁ ਕਿਰਪਾ ਕਰਿ ਕਿਰਪਾ ਲੇਹੁ ਉਬਾਰੇ ਰਾਮ ॥੪॥੪॥
har Dhaarahu har Dhaarahu kirpaa kar kirpaa layho ubaaray raam. ||4||4||
O’ God, please show mercy and save us from the vices. ||4||4||
ਹੇ ਹਰੀ ਕਿਰਪਾ ਕਰ! ਹੇ ਹਰੀ ਕਿਰਪਾ ਕਰ! (ਸਾਨੂੰ ਵਿਕਾਰਾਂ ਤੋਂ) ਬਚਾ ਲੈ ॥੪॥੪॥

ہرِ دھارہُ ہرِ دھارہُ کِرپا کرِ کِرپا لیہُ اُبارے رام ॥੪॥੪॥
خدا اپنی مہربانیوں سے بد عملوں اور برائیوں سے بچاؤ۔
ਵਡਹੰਸੁ ਮਹਲਾ ੪ ਘੋੜੀਆ
vad-hans mehlaa 4 ghorhee-aa
Raag Wadahans, Fourth Guru, The Wedding Procession Songs:
ਰਾਗ ਵਡਹੰਸ ਵਿੱਚ ਗੁਰੂ ਰਾਮਦਾਸ ਜੀ ਦੀ ਬਾਣੀ ‘ਘੋੜੀਆਂ’।
ۄڈہنّسُ مہلا ੪ گھوڑیِیا
یہ گھوڑی جیسا انسانی جسم خدا نے پیدا کیا ہے

ੴ ਸਤਿਗੁਰ ਪ੍ਰਸਾਦਿ ॥
ik-oNkaar satgur parsaad.
One eternal God, realized by the grace of The True Guru:
ਅਕਾਲ ਪੁਰਖ ਇੱਕ ਹੈ ਅਤੇ ਸਤਿਗੁਰੂ ਦੀ ਕਿਰਪਾ ਨਾਲ ਮਿਲਦਾ ਹੈ।

ੴ ستِگُر پ٘رسادِ ॥
ایک لازوال خدا ، سچے گرو کے فضل سے سمجھا گیا
ਦੇਹ ਤੇਜਣਿ ਜੀ ਰਾਮਿ ਉਪਾਈਆ ਰਾਮ ॥
dayh tayjan jee raam upaa-ee-aa raam.
Human body is like a young mare which has been brought in this world by God.
ਮਨੁੱਖ ਦੀ ਇਹ ਕਾਂਇਆਂ (ਮਾਨੋ) ਘੋੜੀ ਹੈ (ਇਸ ਨੂੰ) ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੇ ਪੈਦਾ ਕੀਤਾ ਹੈ।

دیہ تیجنھِ جیِ رامِ اُپائیِیا رام ॥
ویہہ۔ جسم ۔ سیجن۔ گھوڑی ۔ اپائیا۔ پیدا کیا ۔ سانس جنم۔ انسانی زندگی ۔
انسانی جسم ایک جوان گھوڑی کی طرح ہے جو خدا نے اس دنیا میں لایا ہے
ਧੰਨੁ ਮਾਣਸ ਜਨਮੁ ਪੁੰਨਿ ਪਾਈਆ ਰਾਮ ॥
Dhan maanas janam punn paa-ee-aa raam.
Fortunate is this human life, which we have been blessed with only as a result of some past virtuous deeds.
ਮਨੁੱਖਾ ਜਨਮ ਭਾਗਾਂ ਵਾਲਾ ਹੈ ਜੋ ਚੰਗੀ ਕਿਸਮਤ ਨਾਲ ਹੀ ਲਭਦਾ ਹੈ।

دھنّنُ مانھس جنمُ پُنّنِ پائیِیا رام ॥
وڈپنے ۔ بھاری ثواب کی وجہ سے ۔
اچھے سونے کی مانند قیمتی جسم بھاری ثوابوں سے ملتا ہے ۔

ਮਾਣਸ ਜਨਮੁ ਵਡ ਪੁੰਨੇ ਪਾਇਆ ਦੇਹ ਸੁ ਕੰਚਨ ਚੰਗੜੀਆ ॥
maanas janam vad punnay paa-i-aa dayh so kanchan changrhee-aa.
Human beings are blessed with this body due to some past good deeds, but the human body is radiant and valuable like gold.
ਮਨੁੱਖਾ ਜਨਮ ਵੱਡੀ ਕਿਸਮਤ ਨਾਲ ਹੀ ਲੱਭਦਾ ਹੈ, ਪਰ ਮਨੁੱਖ ਦੀ ਕਾਂਇਆਂ ਸੋਨੇ ਵਰਗੀ ਹੈ ਤੇ ਸੋਹਣੀ ਹੈ,

مانھس جنمُ ۄڈ پُنّنے پائِیا دیہ سُ کنّچن چنّگڑیِیا ॥
دیہہ سو کنچن چنگڑیا۔ جسم جو اھے قیمتی سونے کی امنند ہے ۔
جو انسان مرشد کی وساطت سےا لہٰی نام کے گل لالہ کی مانند شوخ نیئے رنگ سے متاثر ہوجاتا ہے
ਗੁਰਮੁਖਿ ਰੰਗੁ ਚਲੂਲਾ ਪਾਵੈ ਹਰਿ ਹਰਿ ਹਰਿ ਨਵ ਰੰਗੜੀਆ ॥
gurmukh rang chaloolaa paavai har har har nav rangrhee-aa.
Anyone who is imbued with deep love of God through guidance of the Guru, is rejuvenated by meditating on Naam.
ਜੇਹੜਾ ਗੁਰੂ ਦੀ ਸਰਨ ਪੈ ਕੇ ਹਰਿ-ਨਾਮ ਦਾ ਗੂੜ੍ਹਾ ਰੰਗ ਹਾਸਲ ਕਰਦਾ ਹੈ, ਉਸ ਦੀ ਕਾਂਇਆਂ ਹਰਿ-ਨਾਮ ਦੇ ਨਵੇਂ ਰੰਗ ਨਾਲ ਰੰਗੀ ਜਾਂਦੀ ਹੈ।

گُرمُکھِ رنّگُ چلوُلا پاۄےَ ہرِ ہرِ ہرِ نۄ رنّگڑیِیا ॥
گورمکھ ۔ مرشد کے زریعے ۔ رنگ چلولا ۔ چوں لالہ ۔ فارسی کا لفظ ہے جو پوست کے پودے پر آتا ہے ۔ لالہ کی مانند شوخ رنگ ۔ ہر نو ۔ الہٰی نیئے رنگ ۔ رنگڑیا ۔ رنگ ہوگیا ۔ متاثر ہوا۔ بانکی ۔ نخرے ولای ۔ ٹیرھے ۔ انداز ولای ۔ خوبصورت ۔ جت ہر جاپی
الہٰی ریاض و عبادت سے سہاونی ہوجاتی ہے ۔
ਏਹ ਦੇਹ ਸੁ ਬਾਂਕੀ ਜਿਤੁ ਹਰਿ ਜਾਪੀ ਹਰਿ ਹਰਿ ਨਾਮਿ ਸੁਹਾਵੀਆ ॥
ayh dayh so baaNkee jit har jaapee har har naam suhaavee-aa.
This body is very elegant because of which I can meditate on God, and by meditating on God’s Name it becomes all the more attractive.
ਇਹ ਕਾਂਇਆਂ ਸੋਹਣੀ ਹੈ ਕਿਉਂਕਿ ਇਸ ਕਾਂਇਆਂ ਨਾਲ ਮੈਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਜਪ ਸਕਦਾ ਹਾਂ, ਹਰਿ-ਨਾਮ ਦੀ ਬਰਕਤਿ ਨਾਲ ਇਹ ਕਾਂਇਆਂ ਸੋਹਣੀ ਬਣ ਜਾਂਦੀ ਹੈ।

ایہ دیہ سُ باںکیِ جِتُ ہرِ جاپیِ ہرِ ہرِ نامِ سُہاۄیِیا ॥
ہر ہر نام سہاویا ۔ الہٰی نام سے خوبصورت ہوگئی ۔ نام سکھائیا۔ نام جو ساتھی و دوست ہے
یہ جسم بہت خوبصورت ہے جس کی وجہ سے میں خدا کا دھیان کرسکتا ہوں ، اور خدا کے نام پر غور کرنے سے یہ اور بھی پرکشش ہوجاتا ہے
ਵਡਭਾਗੀ ਪਾਈ ਨਾਮੁ ਸਖਾਈ ਜਨ ਨਾਨਕ ਰਾਮਿ ਉਪਾਈਆ ॥੧॥
vadbhaagee paa-ee naam sakhaa-ee jan naanak raam upaa-ee-aa. ||1||
It is only by great good fortune that this human body is obtained, O’ Nanak, God has created this human body to meditate on Him. ||1||
ਉਸੇ ਵੱਡੇ ਭਾਗਾਂ ਵਾਲੇ ਹਨ ਜਿਨ੍ਹਾਂ ਦਾ ਮਿਤਰ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਹੈ। ਹੇ ਦਾਸ ਨਾਨਕ! (ਨਾਮ ਸਿਮਰਨ ਵਾਸਤੇ ਹੀ) ਇਹ ਕਾਂਇਆਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੇ ਪੈਦਾ ਕੀਤੀ ਹੈ ॥੧॥

ۄڈبھاگیِ پائیِ نامُ سکھائیِ جن نانک رامِ اُپائیِیا ॥੧॥
۔ ناک رام اپائیا ۔ اے نانک خدا نے پیدا کی ہے ۔
اے خادم نانک یہ بلند قسمت سےا نسان نے یہ جسم حاصل کیا ہے
جس سے الہٰی عبادت ہو سکتی ہے اور الہٰی نام جسکا دوست اور امداد ہوجاتا ہے خدا نے پیدا کیاہے ۔

ਦੇਹ ਪਾਵਉ ਜੀਨੁ ਬੁਝਿ ਚੰਗਾ ਰਾਮ ॥
dayh paava-o jeen bujh changa raam.
By reflecting on the virtues of God, I put the saddle of God’s praises on my body-mare.
ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਗੁਣਾਂ ਨੂੰ ਵਿਚਾਰ ਕੇ ਮੈਂ (ਆਪਣੇ ਸਰੀਰ-ਘੋੜੀ ਉਤੇ, ਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹ ਦੀ) ਕਾਠੀ ਪਾਂਦਾ ਹਾਂ,

دیہ پاۄءُ جیِنُ بُجھِ چنّگا رام ॥
ویہہ پاوؤ رین ۔ جسم جو ایک گھوری کی مانند ہے ۔ اس کے لئے رہن یا کاتھی نیک خیال اچھی سمجھ ہے ۔ مراد برے خیالات کو نیک سمجھ اور خیالات کے زیر رکھا جائے ۔
میں نیکیوں کو سمجھ کر نیک خیالات کی زین یا کاٹھی اپنے اس جسم پر ڈالتا ہوں

ਚੜਿ ਲੰਘਾ ਜੀ ਬਿਖਮੁ ਭੁਇਅੰਗਾ ਰਾਮ ॥
charh langhaa jee bikham bhu-i-angaa raam.
In this way riding this body-mare by meditating on God’s Name, I hope to swim across this torturous and difficult worldly ocean.
ਇੰਜ ਇਸ ਉਤੇ ਚੜ੍ਹ ਕੇ ਮੈਂ ਇਸ ਔਖੇ (ਤਰੇ ਜਾਣ ਵਾਲੇ) ਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰ ਤੋਂ ਪਾਰ ਲੰਘਦਾ ਹਾਂ।

چڑِ لنّگھا جیِ بِکھمُ بھُئِئنّگا رام ॥
چڑھ لنگھا ۔ اس جسم پو سوار ہوکر۔ وکھم بھونگا ۔ دشوار گذار دنیاوی سمندر۔
اس طرح سے خدا کے نام پر غور کرکے اس جسمانی گھوڑی پر سوار ہوں ، مجھے امید ہے کہ اس اذیت ناک اور مشکل دنیاوی سمندر میں تیرکر گزر جاوں گا
ਬਿਖਮੁ ਭੁਇਅੰਗਾ ਅਨਤ ਤਰੰਗਾ ਗੁਰਮੁਖਿ ਪਾਰਿ ਲੰਘਾਏ ॥
bikham bhu-i-angaa anattarangaa gurmukh paar langhaa-ay.
A very rare Guru’s follower can cross this dreadful worldly ocean in which countless waves of vices arise.
ਕੋਈ ਵਿਰਲਾ ਹੀ ਗੁਰੂ ਦੇ ਸਨਮੁਖ ਰਹਿਣ ਵਾਲਾ ਮਨੁੱਖ (ਹੀ) ਇਸ ਬੇਅੰਤ ਲਹਿਰਾਂ ਵਾਲੇ ਔਖੇ ਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰ ਤੋਂ ਪਾਰ ਲੰਘਦਾ ਹੈ।

بِکھمُ بھُئِئنّگا انت ترنّگا گُرمُکھِ پارِ لنّگھاۓ ॥
انت ترنگا ۔ جس میں بیشمار لہریں اور مدو جزو اٹھتے ہیں ۔ گورمکھ پار لنگائے ۔ مرشد کے زریعے عبور ہو سکتا ہے ۔ مراد زندگی کامیاب بنائی جا سکتی ہے ۔
ایک بہت ہی نایاب گرو کا پیروکار اس خوفناک دنیاوی سمندر کو عبور کرسکتا ہے جس میں وسوسوں کی ان گنت لہریں ابھرتی ہیں۔
ਹਰਿ ਬੋਹਿਥਿ ਚੜਿ ਵਡਭਾਗੀ ਲੰਘੈ ਗੁਰੁ ਖੇਵਟੁ ਸਬਦਿ ਤਰਾਏ ॥
har bohith charh vadbhaagee langhai gur khayvat sabadtaraa-ay.
A very rare fortunate person can cross the worldly ocean of of vices by boarding the ship of God’s Name and the Guru helps such a person to cross over by attuning to Naam.
ਕੋਈ ਵਿਰਲਾ ਵੱਡੇ ਭਾਗਾਂ ਵਾਲਾ ਮਨੁੱਖ ਹਰਿ-ਨਾਮ ਦੇ ਜਹਾਜ਼ ਵਿਚ ਚੜ੍ਹ ਕੇ ਪਾਰ ਲੰਘਦਾ ਹੈ, ਗੁਰੂ-ਮਲਾਹ ਆਪਣੇ ਸ਼ਬਦ ਵਿਚ ਜੋੜ ਕੇ ਪਾਰ ਲੰਘਾ ਲੈਂਦਾ ਹੈ।

ہرِ بوہِتھِ چڑِ ۄڈبھاگیِ لنّگھےَ گُرُ کھیۄٹُ سبدِ تراۓ ॥
ہر بوہتھ ۔ خدا جہاز ہے ۔ وڈبھاگی لنگھے ۔ بلدن قسمت سے پار ہوتا ے ۔ گر کھوٹ۔ مرشد ملاح۔ سبد ترائے ۔
ایک بہت ہی نایاب خوش نصیب انسان خدا کے نام کے جہاز پر سوار ہوکر دنیا کے وسوسے دنیا کے سمندر کو عبور کرسکتا ہے اور گرو ایسے شخص کو نام پر پہونچ کر عبور کرنے میں مدد کرتا ہے۔
ਅਨਦਿਨੁ ਹਰਿ ਰੰਗਿ ਹਰਿ ਗੁਣ ਗਾਵੈ ਹਰਿ ਰੰਗੀ ਹਰਿ ਰੰਗਾ ॥
an-din har rang har gun gaavai har rangee har rangaa.
The person, who by attuning to God, keeps singing His praises,
ਜੇਹੜਾ ਮਨੁੱਖ ਹਰ ਵੇਲੇ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਪ੍ਰੇਮ-ਰੰਗ ਵਿਚ (ਟਿਕ ਕੇ) ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੀ ਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹ ਦੇ ਗੀਤ ਗਾਂਦਾ ਰਹਿੰਦਾ ਹੈ,

اندِنُ ہرِ رنّگِ ہرِ گُنھ گاۄےَ ہرِ رنّگیِ ہرِ رنّگا ॥
کلام ۔ سبق ۔ پندو نصائح سے عبور کرتا ہے ۔ا ندن ۔ ہر روز۔ ہر رنگ ۔ الہٰی پریم پیار۔ ہر گن گاوے ۔ الہٰی حمدوثناہ کرے ۔ صفت صلاح کیجئے ۔ ہر رنگی ۔ الہٰی پریم ۔ ہر رنگا ۔ خدا اسے متاثر کر دے ۔
وہ شخص ، جو خدا سے منسلک ہوکر اسکی حمد گاتے رہتا ہے

ਜਨ ਨਾਨਕ ਨਿਰਬਾਣ ਪਦੁ ਪਾਇਆ ਹਰਿ ਉਤਮੁ ਹਰਿ ਪਦੁ ਚੰਗਾ ॥੨॥
jan naanak nirbaan pad paa-i-aa har utam har pad changa. ||2||
O’ Nanak, such a person, attuned to Naam, receives high and pure spiritual status where no worldly desire can afflict him. ||2||
ਹੇ ਦਾਸ ਨਾਨਕ! ਉਹ ਹਰਿ ਨਾਮ-ਰੰਗ ਵਿਚ ਰੰਗਿਆ ਜਾਂਦਾ ਹੈ ਤੇ ਉਹ ਉੱਚਾ ਤੇ ਸੁੱਚਾ ਆਤਮਕ ਦਰਜਾ ਹਾਸਲ ਕਰ ਲੈਂਦਾ ਹੈ ਜਿਥੇ ਵਾਸਨਾ ਪੋਹ ਨਹੀਂ ਸਕਦੀ ॥੨॥

جن نانک نِربانھ پدُ پائِیا ہرِ اُتمُ ہرِ پدُ چنّگا ॥੨॥
نربان ۔ بلا عادات ۔ وہ حالت جس میں کسی قسم کی عاوت کے زیر نہ ہوا ۔ بلا خواہش ۔
اے نانک۔ اس سے انسان کو سچا پاک بلند رتبہ روحانی درجہ حاصل کر لیتا ہے جہاں انسان خواہشات اثر انداز نہیں ہو سکتیں۔

ਕੜੀਆਲੁ ਮੁਖੇ ਗੁਰਿ ਗਿਆਨੁ ਦ੍ਰਿੜਾਇਆ ਰਾਮ ॥
karhee-aal mukhay gur gi-aan drirh-aa-i-aa raam.
The person who has been blessed by God with understanding of spiritual living, this wisdom is akin to a whip of love to his body-mare.
ਜਿਸ ਮਨੁੱਖ ਦੇ ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਗੁਰੂ ਨੇ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੀ ਸੂਝ ਪੱਕੀ ਕਰ ਦਿੱਤੀ, ਉਸ ਨੇ ਇਹ ਸੂਝ (ਆਪਣੀ ਕਾਂਇਆਂ-ਘੋੜੀ ਦੇ) ਮੂੰਹ ਵਿਚ (ਮਾਨੋ) ਲਗਾਮ ਦੇ ਦਿੱਤੀ ਹੈ।

کڑیِیالُ مُکھے گُرِ گِیانُ د٘رِڑائِیا رام ॥
کڑیال مکھے گر گیان۔ جسمانی گھوڑی کے منہ میں مرشد نے علم کا فولادی لگام ۔ درڑائیا ۔ پختہ طورپر ڈالا ہے ۔
جس انسان کے دل میں یا ذہن میں مرشد نے اخلاقی یا ذہنی زندگی گذارنے کا سلیقہ و طریقہ مکمل طور پر پختہ کر دیا
ਤਨਿ ਪ੍ਰੇਮੁ ਹਰਿ ਚਾਬਕੁ ਲਾਇਆ ਰਾਮ ॥
tan paraym har chaabak laa-i-aa raam.
Love of God gets created in his heart which keeps whipping the body-mare.
ਉਸ ਦੇ ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਪਿਆਰ ਪੈਦਾ ਹੁੰਦਾ ਹੈ, ਜੋ (ਮਾਨੋ) ਕਾਂਇਆਂ-ਘੋੜੀ ਨੂੰ ਚਾਬੁਕ ਮਾਰਦਾ ਰਹਿੰਦਾ ਹੈ।

تنِ پ٘ریمُ ہرِ چابکُ لائِیا رام ॥
تن ۔ جسم۔ بدن۔ چابک ۔ چانٹا۔ ڈنڈا۔
یہس مجھو کہ اس نے اپنی جسمانی گھوڑی کے منہ میں سخت لگام ڈال دیا
ਤਨਿ ਪ੍ਰੇਮੁ ਹਰਿ ਹਰਿ ਲਾਇ ਚਾਬਕੁ ਮਨੁ ਜਿਣੈ ਗੁਰਮੁਖਿ ਜੀਤਿਆ ॥
tan paraym har har laa-ay chaabak man jinai gurmukh jeeti-aa.
The Guru’s follower conquers his mind and wins the battle of life by applying the whip of love of Naam to his body-mare.
ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਪੈਦਾ ਹੋਇਆ ਹਰਿ-ਨਾਮ ਦਾ ਪ੍ਰੇਮ ਮਨੁੱਖ ਆਪਣੀ ਕਾਂਇਆਂ-ਘੋੜੀ ਨੂੰ ਚਾਬੁਕ ਮਾਰਦਾ ਰਹਿੰਦਾ ਹੈ, ਤੇ, ਆਪਣੇ ਮਨ ਨੂੰ ਵੱਸ ਵਿਚ ਕਰੀ ਰੱਖਦਾ ਹੈ।

تنِ پ٘ریمُ ہرِ ہرِ لاءِ چابکُ منُ جِنھےَ گُرمُکھِ جیِتِیا ॥
پریم پیار۔ من جس نے ۔ دل پر فتح۔ گورمکھ جیتیا ۔ مرشد نے فتح پائی ۔ گذار۔
دل میں الہٰی پریم پیار پیدا ہوتا ہے ۔ یہ پیار اس جسمانی گھوڑی کے لئے ایک چابک مارنا ہے اس سے نفس قابو رہتا ہے ۔ دل میں الہٰی نام کا پیارا پیدا ہونا جسمانی گھوڑی کو چابک مارنا ہے مگر اس نفس پر فتح مرشد کے ذریعے ہی حاصل ہو سکتی ہے
ਅਘੜੋ ਘੜਾਵੈ ਸਬਦੁ ਪਾਵੈ ਅਪਿਉ ਹਰਿ ਰਸੁ ਪੀਤਿਆ ॥
agh-rho gharhaavai sabad paavai api-o har ras peeti-aa.
In this way such a person trains the untrained mind with the Divine word and drinks the rejuvenating nectar of God’s Name.
ਇੰਜ ਉਹ ਅੱਲ੍ਹੜ ਮਨ ਨੂੰ ਘੜ ਲੈਂਦਾ ਹੈ, ਗੁਰੂ ਦਾ ਸ਼ਬਦ ਪ੍ਰਾਪਤ ਕਰਦਾ ਹੈ ਤੇ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੇਣ ਵਾਲਾ ਹਰਿ-ਨਾਮ-ਰਸ ਪੀਂਦਾ ਰਹਿੰਦਾ ਹੈ।

اگھڑو گھڑاۄےَ سبدُ پاۄےَ اپِءُ ہرِ رسُ پیِتِیا ॥
اگھڑو گھڑاوے ۔ نادرست کو درست کرے ۔ سبد پاوے ۔ سبق حاصل کرے ۔ اپیو ۔ انمرت۔ آب حیات ۔ ہر رس۔ الہٰی لطف ۔ ضائقہ
۔ اس بیلگام ان گھڑ ۔ سبق مرشد سے روحانی زندگی عنایت کرنے والا آب حیات ( ست ۔ سنتوکھ ۔ دھرم دھیرج وغیرہ کی کسوٹی اور کٹھالی میں ڈال کر گھڑ یا راہ راست پر ڈال لیا جاتا ہے ۔ یعنی سچیار یا خوش اخلاق ہوجاتا ہے

ਸੁਣਿ ਸ੍ਰਵਣ ਬਾਣੀ ਗੁਰਿ ਵਖਾਣੀ ਹਰਿ ਰੰਗੁ ਤੁਰੀ ਚੜਾਇਆ ॥
sun sarvan banee gur vakhaanee har rang turee charhaa-i-aa.
Such a person attunes himself to love of God by hearing the hymns uttered by the Guru with his own ears and thus controls his body mare.
ਆਪਣੇ ਕੰਨਾਂ ਨਾਲ ਗੁਰੂ ਦੀ ਉਚਾਰੀ ਬਾਣੀ ਸੁਣ ਕੇ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਪਿਆਰ ਪੈਦਾ ਕਰਦਾ ਹੈ, ਤੇ ਇਸ ਤਰ੍ਹਾਂ ਕਾਂਇਆਂ-ਘੋੜੀ ਉਤੇ ਸਵਾਰ ਹੁੰਦਾ ਹੈ (ਕਾਂਇਆਂ ਨੂੰ ਵੱਸ ਕਰਦਾ ਹੈ)।

سُنھِ س٘رۄنھ بانھیِ گُرِ ۄکھانھیِ ہرِ رنّگُ تُریِ چڑائِیا ॥
سن سبد ن بانی ۔ کانوں سے کلام سنکر ۔ گر وکھانی ۔ مرشد نے بیان کی ۔ ہر رنگ
تو سبق مرشد کلام و واعظ مرشد کو غور و خوض سے سنکر سمجھ کر الہٰی پیار پیدا کر لیتا ہے تب سمجھو کہ انسان اسی جسمانی گھوڑی کا سوار ہو گیا اور روحانی واخلاقی فتح حاصل کر لی اور نفس پر قابو پالیا ۔

ਮਹਾ ਮਾਰਗੁ ਪੰਥੁ ਬਿਖੜਾ ਜਨ ਨਾਨਕ ਪਾਰਿ ਲੰਘਾਇਆ ॥੩॥
mahaa maarag panth bikh-rhaa jan naanak paar langhaa-i-aa. ||3||
In this way, O’ Nanak, the Guru helps that person complete the long and hazardous journey of human life and cross the worldly ocean of vices. ||3||
ਹੇ ਦਾਸ ਨਾਨਕ! (ਇਹ ਮਨੁੱਖਾ ਜੀਵਨ) ਬੜਾ ਔਖਾ ਪੈਂਡਾ ਹੈ ਜੋ (ਗੁਰੂ ਸਰਨ ਪਇਆਂ) ਪਾਰ ਲੰਘਾ ਜਾਂਦਾ ਹੈ ॥੩॥

مہا مارگُ پنّتھُ بِکھڑا جن نانک پارِ لنّگھائِیا ॥੩॥
الہٰی پریم ۔ تی ۔ گھوڑی ۔ مارگ۔ راستہ ۔ وکھڑا۔ دشوار
اے نانک۔ انسانی زندگی گذارنے کا راستہ نہایت دشوار گذار ہے مرشد کے بتائے ہوئے صراط مستقیم پر چل کر ہی طے ہو سکتا ہے اور منزل مقصود حاصل ہو سکتا ہے ۔

ਘੋੜੀ ਤੇਜਣਿ ਦੇਹ ਰਾਮਿ ਉਪਾਈਆ ਰਾਮ ॥
ghorhee tayjandayh raam upaa-ee-aa raam.
This young and healthy human body-mare has been created by God,
گھوڑیِ تیجنھِ دیہ رامِ اُپائیِیا رام ॥
تیجن۔ گھوڑی ۔ دیہہ ۔ جسم۔ تکھائیا ۔ گھوڑی ۔ دھر ۔ منزل مقصود پر ۔ خدا کی طرف سے ۔ جاپے ۔ ریاض۔ عبادت
یہ انسانی جسم خدا نے پیدا کی ہے جو ایک گھوڑی کی مانند ہے جس کے ذریعے الہٰی ریاض و عبادت کی جا سکتی ہے ۔
ਇਹ ਮਨੁੱਖਾ ਸਰੀਰ-ਘੋੜੀ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੇ ਪੈਦਾ ਕੀਤੀ ਹੈ,
ਜਿਤੁ ਹਰਿ ਪ੍ਰਭੁ ਜਾਪੈ ਸਾ ਧਨੁ ਧੰਨੁ ਤੁਖਾਈਆ ਰਾਮ ॥
jit har parabh jaapai saa Dhan Dhan tukhaa-ee-aa raam.
Blessed is that person who meditates on God’s Name in this life; he is fortunate and gets appreciated.
ਜੋ ਮਨੁੱਖ (ਸਰੀਰ-ਘੋੜੀ) ਦੀ ਰਾਹੀਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਜਪਦਾ ਹੈ, ਉਹ ਧੰਨ ਹੈ, ਉਸ ਨੂੰ ਸ਼ਾਬਾਸ਼ ਮਿਲਦੀ ਹੈ,

جِتُ ہرِ پ٘ربھُ جاپےَ سا دھنُ دھنّنُ تُکھائیِیا رام ॥
یا جس گھوری پر سوار ہو کر زندگی کا سفر طے کیا جا سکتا ہے ۔
ਜਿਤੁ ਹਰਿ ਪ੍ਰਭੁ ਜਾਪੈ ਸਾ ਧੰਨੁ ਸਾਬਾਸੈ ਧੁਰਿ ਪਾਇਆ ਕਿਰਤੁ ਜੁੜੰਦਾ ॥
jit har parabh jaapai saa Dhan saabaasai Dhur paa-i-aa kirat jurhandaa.
That person who meditates on God’s Name is truly blessed; he has been blessed with this body through the past good deeds.
ਜੋ ਮਨੁੱਖ (ਸਰੀਰ-ਘੋੜੀ) ਦੀ ਰਾਹੀਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਜਪਦਾ ਹੈ, ਉਸ ਪਿਛਲੇ ਕੀਤੇ ਕਰਮਾਂ ਦੇ ਸੰਸਕਾਰਾਂ ਦਾ ਇਕੱਠ ਉੱਘੜ ਪੈਂਦਾ ਹੈ।

جِتُ ہرِ پ٘ربھُ جاپےَ سا دھنّنُ ساباسےَ دھُرِ پائِیا کِرتُ جُڑنّدا ॥
کرٹ ۔ کیئے ہوئے اعمال۔ کرت جڑندا۔ اعمال کا مجموعا۔
جس جسمانی گھوڑی کے ذریعے الہٰی عبادت وریاضت کرتا ہے وہ قابل ستائش ہے

ਚੜਿ ਦੇਹੜਿ ਘੋੜੀ ਬਿਖਮੁ ਲਘਾਏ ਮਿਲੁ ਗੁਰਮੁਖਿ ਪਰਮਾਨੰਦਾ ॥
charhdayharhghorhee bikham laghaa-ay mil gurmukh parmaanandaa.
O’ my friend, ride and control this beautiful body-mare which helps us to cross the torturous worldly ocean, and thus by Guru’s grace unite with God Who is the source of Supreme Bliss.
ਇਸ ਸੋਹਣੀ ਕਾਂਇਆਂ-ਘੋੜੀ ਉਤੇ ਚੜ੍ਹ, ਜੋ ਔਖੇ ਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰ ਤੋਂ ਪਾਰ ਲੰਘਾ ਲੈਂਦੀ ਹੈ, (ਇਸ ਦੀ ਰਾਹੀਂ) ਗੁਰੂ ਦੀ ਸਰਨ ਪੈ ਕੇ ਪਰਮ ਆਨੰਦ ਦੇ ਮਾਲਕ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੂੰ ਮਿਲ।

چڑِ دیہڑِ گھوڑیِ بِکھمُ لگھاۓ مِلُ گُرمُکھِ پرماننّدا ॥
وکھم ۔ دشوار۔ دیہڑ گھوڑی ۔ جسمانی گھوڑی ۔ پر مانند۔ مکمل سکون کا ملاک ۔
اور بارگاہ الہٰی سے اس کے اعمالنامے میں اس کے کئے ہوئے اعمال روشن ہو جاتے ہیں ۔ اس جسمانی گھوڑی پر سوار ہوکر اس دشوار گذار زندگی کے سفر کو مرید مرشد کے وسیلے سے مکمل سکون کے آقا کے ملاپ کے لئے سفر طے ہو سکتا ہے ۔

ਹਰਿ ਹਰਿ ਕਾਜੁ ਰਚਾਇਆ ਪੂਰੈ ਮਿਲਿ ਸੰਤ ਜਨਾ ਜੰਞ ਆਈ ॥
har har kaaj rachaa-i-aa poorai mil sant janaa janj aa-ee.
The perfect God has arranged the union of such a soul-bride with Himself and it seems like the marriage party along with the holy congregants has arrived at the house of the soul-bride’s heart.
ਪੂਰਨ ਪਰਮਾਤਮਾ ਨੇ ਜਿਸ ਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀ ਦਾ (ਮਾਨੋ) ਵਿਆਹ ਰਚਾ ਦਿੱਤਾ ਤੇ ਸਤ ਸੰਗੀਆਂ ਨਾਲ ਮਿਲ ਕੇ (ਮਾਨੋ) ਉਸ ਦੀ ਜੰਞ ਆ ਗਈ।

ہرِ ہرِ کاجُ رچائِیا پوُرےَ مِلِ سنّت جنا جنّجنْ آئیِ ॥
کاج ۔ کام ۔ ہر ور ۔ الہٰی لاڑ۔ خاوند۔ جنج ۔ بارات ۔
کامل خدا نے انسان زاد کی شای مقرر کر دی ۔ چونکہ انسانی زندگی اور انسان اس الہٰی نور سے جدا ہوا ہوا ایک جز ہے اور اس کی آخری منزل اس نور میں مل جانا اور مدغم ہونا ہے ۔ اور اپنے ساتھ ملانے کے لئے موقعہ و محل تیار کر دیا
لہذا خدا رسیدہ پادکامن ساتھیوں کے اس الہٰی نور کو اپنے اندر جذب کر نے کے لئے یا ملاپ کے لئے اور الحاق کے لئے

ਜਨ ਨਾਨਕ ਹਰਿ ਵਰੁ ਪਾਇਆ ਮੰਗਲੁ ਮਿਲਿ ਸੰਤ ਜਨਾ ਵਾਧਾਈ ॥੪॥੧॥੫॥
jan naanak har var paa-i-aa mangal mil sant janaa vaaDhaa-ee. ||4||1||5||
O’ devotee Nanak, the soul-bride has realized God as her spouse; upon joining with the saintly persons, she is rejuvenated and sounds of festive music start within her. ||4||1||5||
ਹੇ ਦਾਸ ਨਾਨਕ! ਸੰਤ ਜਨਾਂ ਨੂੰ ਮਿਲ ਕੇ ਉਸ ਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀ ਨੇ ਪ੍ਰਭੂ-ਪਤੀ (ਦਾ ਮਿਲਾਪ) ਹਾਸਲ ਕਰ ਲਿਆ, ਉਸ ਨੇ ਆਤਮਕ ਆਨੰਦ ਲੱਭ ਲਿਆ, ਉਸ ਦੇ ਅੰਦਰ ਆਤਮਕ ਸ਼ਾਦੀਆਨੇ ਵੱਜ ਪਏ ॥੪॥੧॥੫॥

جن نانک ہرِ ۄرُ پائِیا منّگلُ مِلِ سنّت جنا ۄادھائیِ ॥੪॥੧॥੫॥
منگل ۔ خوشی ۔ وادھائی ۔ خوشی کی مبارکباد۔
اے نانک ۔ الہٰی خاوند سے ملاپ ہو گیا انسان نے روحانی سکون حاصل کیا اور روحانی سکون کے شادیانے بجنے لگے۔

ਵਡਹੰਸੁ ਮਹਲਾ ੪ ॥
vad-hans mehlaa 4.
Raag Wadahans, Fourth Guru:
ਦੇਹ ਤੇਜਨੜੀ ਹਰਿ ਨਵ ਰੰਗੀਆ ਰਾਮ ॥
dayh tayjnarhee har nav rangee-aa raam.
This body is like a beautiful female horse, which remains imbued with the ever fresh love of God.
(ਮਾਨੋ) ਉਹ ਕਾਂਇਆਂ ਸੋਹਣੀ ਘੋੜੀ ਹੈ ਜੋ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਪ੍ਰੇਮ ਦੇ ਨਵੇਂ ਰੰਗ ਵਿਚ ਰੰਗੀ ਰਹਿੰਦੀ ਹੈ,

دیہ تیجنڑیِ ہرِ نۄ رنّگیِیا رام ॥
دیہہ تیجڑی ۔ یہ انسانی جسم گھوڑی ہے ۔ نور نگیا ۔ نئے انداز والی ۔
یہ انسانی جسم جو ایک گھوڑی کی مانند ہے جو الہٰی عشق کے نئے و انداز میں مسرور رہتی ہے ۔
ਗੁਰ ਗਿਆਨੁ ਗੁਰੂ ਹਰਿ ਮੰਗੀਆ ਰਾਮ ॥
gur gi-aan guroo har mangee-aa raam.
It keeps requesting the divine knowledge from the Guru.
ਜੋ ਗੁਰੂ ਪਾਸੋਂ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੀ ਸ੍ਰੇਸ਼ਟ ਸੂਝ ਮੰਗਦੀ ਰਹਿੰਦੀ ਹੈ, ਜੋ (ਗੁਰੂ ਪਾਸੋਂ) ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੀ ਸੂਝ ਮੰਗਦੀ ਹੈ,

گُر گِیانُ گُروُ ہرِ منّگیِیا رام ॥
گر گیان ۔علم مرشد ۔ سبق مرشد۔
جو مرشد سے انسانی زندگی کی روحانی و (اخلاق) آخلاقی سمجھ چاہتی ہے ۔