Urdu-Raw-Page-516

ਨਾਨਕਵਾਹੁਵਾਹੁਗੁਰਮੁਖਿਪਾਈਐਅਨਦਿਨੁਨਾਮੁਲਏਇ॥੧॥
naanak vaahu vaahu gurmukh paa-ee-ai an-din naam la-ay-ay. ||1||
O’ Nanak, one who follows the Guru’s teachings, receives the gift of singing God’s praises and then he always recites His Name. ||1||
ਹੇਨਾਨਕ! ਜੋਗੁਰੂਦੇਹੁਕਮਵਿਚਤੁਰਦਾਹੈਉਸਨੂੰਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਦੀਦਾਤਮਿਲਦੀਹੈ, ਉਹਹਰਵੇਲੇਪ੍ਰਭੂਦਾਨਾਮਜਪਦਾਹੈ॥੧॥
نانکۄاہُ ۄاہُگُرمُکھِ پائیِئےَاندِنُ نامُ لئیءِ\
۔ اے نانک۔ الہٰی حمدوثناہ مرید مرشد ہوکر حاصل ہوتی ہے ۔ وہ ہر وقت الہٰی نام کی ریاض کرتا ہے ۔

ਮਃ੩॥
mehlaa 3.
Third Guru:

ਬਿਨੁਸਤਿਗੁਰਸੇਵੇਸਾਤਿਨਆਵਈਦੂਜੀਨਾਹੀਜਾਇ॥
bin satgur sayvay saat na aavee doojee naahee jaa-ay.
Celestial peace is not attained without following the Guru’s teachings and except the Guru’s refuge there is no other place from where it can be obtained. ਸਤਿਗੁਰੂਦੀਦੱਸੀਸੇਵਾਕਰਨਤੋਂਬਿਨਾਸ਼ਾਂਤੀਨਹੀਂਆਉਂਦੀਤੇਗੁਰੂਤੋਂਬਿਨਾਹੋਰਕੋਈਥਾਂਨਹੀਂਜਿਥੇਇਹਮਿਲਸਕੇ,
بِنُستِگُرسیۄےساتِنآۄئیِدوُجیِناہیِجاءِ॥
رامت ۔ شانتی ۔ سکون ۔ جائے ۔ جگہ ۔
سچے مرشد کی خدمت کے بغیر سکون حاصل نہیں ہوتا

ਜੇਬਹੁਤੇਰਾਲੋਚੀਐਵਿਣੁਕਰਮੈਨਪਾਇਆਜਾਇ॥
jay bahutayraa lochee-ai vin karmai na paa-i-aa jaa-ay.
No matter how much we yearn, God cannot be realized without His grace.
ਭਾਵੇਂਕਿਤਨੀਹੀਤਾਂਘਕਰੀਏ, ਮੇਹਰਤੋਂਬਿਨਾਪ੍ਰਭੂਦੀਪ੍ਰਾਪਤੀਨਹੀਂਹੋਸਕਦੀ।
جےبہُتیرالوچیِئےَۄِنھُکرمےَنپائِیاجاءِ॥
لوچیئے ۔ خواہش۔ تمنا۔ کرمے ۔ بخشش
خواہ کوئی کتنی خواہش کیوں نہ کرے بغیر الہٰی رحمت کے الہٰی وصل حاسل نہیں ہوتا

ਜਿਨ੍ਹ੍ਹਾਅੰਤਰਿਲੋਭਵਿਕਾਰੁਹੈਦੂਜੈਭਾਇਖੁਆਇ॥
jinHaa antar lobh vikaar hai doojai bhaa-ay khu-aa-ay.
Those who harbor the evil of greed are consumed by duality, the love of things other than God.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਦੇਹਿਰਦੇਵਿਚਲੋਭਦਾਔਗੁਣਹੈ, ਉਹਮਾਇਆਦੇਪਿਆਰਵਿਚਭੁੱਲੇਹੋਏਹਨ,
جِن٘ہ٘ہاانّترِلوبھۄِکارُہےَدوُجےَبھاءِکھُیاءِ॥
۔ لوبھ ۔ لالچ ۔ وکار۔ بدکردار ۔ برائی ۔ دوبے بھائے ۔ دوسروں سے محبت۔ کھوائے ۔ ذلیل وخوار ہیں۔
جن کے دل میں لالچ اور برائیاں ہیں اور دنیاوی دولت کی محبت میں بھٹک رہے ہیں

ਜੰਮਣੁਮਰਣੁਨਚੁਕਈਹਉਮੈਵਿਚਿਦੁਖੁਪਾਇ॥
jaman maran na chuk-ee ha-umai vich dukh paa-ay.
Their cycle of birth and death doesn’t end and in egotism they suffer.
ਉਹਨਾਂਦਾਜੰਮਣਾਮਰਣਾਮੁੱਕਦਾਨਹੀਂਤੇਉਹਅਹੰਕਾਰਵਿਚਕਲੇਸ਼ਉਠਾਉਂਦੇਹਨ।
جنّمنھُمرنھُنچُکئیِہئُمےَۄِچِدُکھُپاءِ॥
چکئی ۔ ختم نہیں ہوتا۔ ہونمے ۔ خودی ۔ دکھ پائے ۔ عذاب برداشت کرتا ہے ۔
انکا تناسخ ختم نہیں ہوتا خودی میں محصور عذاب پاتے ہیں

ਜਿਨ੍ਹ੍ਹਾਸਤਿਗੁਰਸਿਉਚਿਤੁਲਾਇਆਸੁਖਾਲੀਕੋਈਨਾਹਿ॥
jinHaa satgur si-o chit laa-i-aa so khaalee ko-ee naahi.
Those who have attuned their minds to the true Guru’s word, none of them remained without God’s grace.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਨੇਆਪਣੇਸਤਿਗੁਰੂਨਾਲਚਿੱਤਜੋੜਿਆਹੈਉਹਨਾਂਵਿਚੋਂਕੋਈਵੀਪ੍ਰਭੂਦੇਮਿਲਾਪਤੋਂਖਾਲੀਨਹੀਂਰਿਹਾ,
جِن٘ہ٘استِگُرسِءُچِتُلائِیاسُکھالیِکوئیِناہِ॥
چت لائیا۔ پیار کیا۔ خالی ۔ کمی
جنہون نےسچے مرشد سے دلی پیار کیا انہیں وصل نصیب ہوا

ਤਿਨਜਮਕੀਤਲਬਨਹੋਵਈਨਾਓਇਦੁਖਸਹਾਹਿ॥
tin jam kee talab na hova-ee naa o-ay dukh sahaahi.
The fear of death does not bother them and they do not endure any misery.
ਉਹਨਾਂਨੂੰਜਮਦਾਸੱਦਾਨਹੀਂਪੈਂਦਾ (ਉਹਨਾਂਨੂੰਮੌਤਦਾਸਹਮਪੋਹਨਹੀਂਸਕਦਾ)।ਉਹਦੁੱਖਨਹੀਂਸਹਿੰਦੇ l
تِنجمکیِتلبنہوۄئیِنااوءِدُکھسہاہِ॥
۔ تن۔ انکو ۔ نکب۔ طلب۔ طلبی ۔ ابھرے ۔ بچے ۔
ان کو فرشتہ موت کی طلبی ختم ہوگئی نہ عذاب پائیا

ਨਾਨਕਗੁਰਮੁਖਿਉਬਰੇਸਚੈਸਬਦਿਸਮਾਹਿ॥੨॥
naanak gurmukh ubray sachai sabad samaahi. ||2||
O’ Nanak, the Guru’s followers rise above the worldly sorrows, and through the divine word, they merge into God. ||2||
ਹੇਨਾਨਕ! ਜੋਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੇਸਨਮੁਖਹੋਏਹਨ, ਉਹ (ਦੁੱਖਾਂਤੋਂ) ਬਚਗਏਹਨਤੇਸੱਚੇਸ਼ਬਦਵਿਚਲੀਨਰਹਿੰਦੇਹਨ॥੨॥
نانکگُرمُکھِاُبرےسچےَسبدِسماہِ॥੨॥
سچے سبد سماہے ۔ سچے کلام میں دھیان دے کر ۔
۔ اے نانک جنہوں نے کی مریدی مرشد کی پائی نجات عذابوں سے اور سچے کلام میں محو ومجذوب رہتے ہیں۔

ਪਉੜੀ॥
pa-orhee.
Pauree:

ਢਾਢੀਤਿਸਨੋਆਖੀਐਜਿਖਸਮੈਧਰੇਪਿਆਰੁ॥
dhaadhee tis no aakhee-ai je khasmai Dharay pi-aar.
He alone is called a bard of God, who enshrines love for his Master-God.
ਜੋਮਨੁੱਖਆਪਣੇਮਾਲਕ-ਪ੍ਰਭੂਨਾਲਪਿਆਰਪਾਉਂਦਾਹੈ, ਉਹੀਪ੍ਰਭੂਦਾਢਾਢੀਅਖਵਾਸਕਦਾਹੈ
ڈھاڈھیِتِسنوآکھیِئےَجِکھسمےَدھرےپِیارُ॥
ڈھاڈی ۔ ڈھڈیا چھوٹی ڈھولک پر گانے والا۔ خصمے ۔ آقا کو ۔ دھرے پیار۔ پیار کرے ۔ الفت سے پیش آئے
جس کا اپنے آقا سے پیار ہے وہی ڈھاڈی کہلا سکتا ہے ۔

ਦਰਿਖੜਾਸੇਵਾਕਰੇਗੁਰਸਬਦੀਵੀਚਾਰੁ॥
dar kharhaa sayvaa karay gur sabdee veechaar.
Always considering himself in God’s presence, he remembers Him and reflects on His virtues through the Guru’s word.
ਉਹਮਨੁੱਖਪ੍ਰਭੂਦੀਹਜ਼ੂਰੀਵਿਚਟਿਕਕੇਉਸਦਾਸਿਮਰਨਕਰਦਾਹੈਤੇਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਰਾਹੀਂਉਸਦੇਗੁਣਾਂਦੀਵਿਚਾਰਕਰਦਾਹੈ।
درِکھڑاسیۄاکرےگُرسبدیِۄیِچارُ॥
۔ در ۔ دروازے پر ۔ سیوا۔ خدمت۔ گر سبدی۔ کلام مرشد۔ وچار۔ سوچے
جو در پر گھڑا مراد الہٰی حضوری می کلام مرشد کی کسوٹی سے بخدمت اس کےاوصاف کی خیال آرائی کرتا اور سوچتا ہے

ਢਾਢੀਦਰੁਘਰੁਪਾਇਸੀਸਚੁਰਖੈਉਰਧਾਰਿ॥
dhaadhee dar ghar paa-isee sach rakhai ur Dhaar.
Such a bard, who keeps God enshrined in the heart, would be able to recognize himself and then he realizes God.
ਉਹਢਾਢੀਪ੍ਰਭੂਨੂੰਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਟਿਕਾਕੇ, ਪ੍ਰਭੂਦੇਚਰਨਾਂਵਿਚਜੁੜਦਾਹੈ,
ڈھاڈھیِدرُگھرُپائِسیِسچُرکھےَاُردھارِ॥
سچ رکھے اردھار۔ حقیقت دلمیں بسائے ۔ وچار ۔ سوچ کر ۔ در گھر ۔ٹھکانہ ۔ سچ رکھے اردھار ۔ حقیقت دل میں بسا کر ۔
جب سچ حقیقت مراد خدا دل میں بساتا ہے ۔ اسے الہٰی در پر ٹھکانہ ملتا ہے

ਢਾਢੀਕਾਮਹਲੁਅਗਲਾਹਰਿਕੈਨਾਇਪਿਆਰਿ॥
dhaadhee kaa mahal aglaa har kai naa-ay pi-aar.
Because of his love for God’s Name, the spiritual status of such a true bard also becomes extremely high.
ਐਸੇਢਾਢੀਨੂੰਪ੍ਰਭੂਦੇਨਾਮਵਿਚਪਿਆਰਕਰਨਨਾਲਉਸਦੇਮਨਦੀਅਵਸਥਾਬਹੁਤਉੱਚੀਹੋਜਾਂਦੀਹੈ,
ڈھاڈھیِکامہلُاگلاہرِکےَناءِپِیارِ॥
محل اگلا ۔ ٹھکانہ ۔ رتبہ۔
الہٰی نام سچ و حقیقت کی محبت سے اسے بلند عظمت و رتبہ روحانی حاصل ہوتاہے ۔

ਢਾਢੀਕੀਸੇਵਾਚਾਕਰੀਹਰਿਜਪਿਹਰਿਨਿਸਤਾਰਿ॥੧੮॥
dhaadhee kee sayvaa chaakree har jap har nistaar. ||18||
Remembering God is the service and duty of the bard; for which God helps him to swim across the world-ocean of vices .||18||
ਉਹਢਾਢੀਇਹੀਸੇਵਾਕਰਦਾਹੈ, ਕਿਉਹਪ੍ਰਭੂਦਾਨਾਮਜਪਦਾਹੈ, ਤੇਪ੍ਰਭੂਉਸਨੂੰਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰਤੋਂਪਾਰਲੰਘਾਲੈਂਦਾਹੈ॥੧੮॥
ڈھاڈھیِکیِسیۄاچاکریِہرِجپِہرِنِستارِ॥੧੮॥
چاکری ۔ خدمتگار ۔ نستہ ۔ بچاتا ہے ۔ کامیاب بناتا ہے ۔
ڈھاڈی کی یہی خدمتگاری اور خدمت ہے کہ وہ الہٰی ریاض و بندگی سے کامیابی سے زندگی گذار بستا ہے ۔

ਸਲੋਕੁਮਃ੩॥
salok mehlaa 3.
Shalok, Third Guru:

ਗੂਜਰੀਜਾਤਿਗਵਾਰਿਜਾਸਹੁਪਾਏਆਪਣਾ॥
goojree jaat gavaar jaa saho paa-ay aapnaa.
Even a milkmaid of low social status, realizes her God
ਜਦੋਂਗਵਾਰਜਾਤਿਵਾਲੀਗੁਜਰੀਨੇਆਪਣਾਖਸਮਲੱਭਲਿਆ,
گوُجریِجاتِگۄارِجاسہُپاۓآپنھا॥
گوجری ۔ ایک دم جن کا پیشہ مویشی چرانا اور ان کی پروش کرنا ے ۔ ذات۔ خاندان ۔ قبیلہ ۔ سوہ ۔ خاوند ۔ آقا۔۔ گرکے
جیسے ایک کمینی ذات والی عورت خاندانی عورت بن جاتی ہے جب وہ اپنا خاوند پا لیتی ہے

ਗੁਰਕੈਸਬਦਿਵੀਚਾਰਿਅਨਦਿਨੁਹਰਿਜਪੁਜਾਪਣਾ॥
gur kai sabad veechaar an-din har jap jaapnaa.
She always remembers God by reflecting on the Guru’s word.
ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੁਆਰਾਵਿਚਾਰਕਰਕੇਹਰਰੋਜ਼ਪ੍ਰਭੂਦਾਸਿਮਰਨਕਰਦੀਹੈ,
گُرکےَسبدِۄیِچارِاندِنُہرِجپُجاپنھا॥
سبد وچیار۔ کلام مرشد کو سمجھ کر۔ اندن ۔ ہر روز۔ ہمیشہ ۔ ہر جپ ۔ الہٰی یاد وریاض ۔
ویسی ہی وہ انسان جو کلام مرشد کو سمجھ کر ہر روز الہٰیریاض کرتا ہے ۔

ਜਿਸੁਸਤਿਗੁਰੁਮਿਲੈਤਿਸੁਭਉਪਵੈਸਾਕੁਲਵੰਤੀਨਾਰਿ॥
jis satgur milai tis bha-o pavai saa kulvantee naar.
One who meets the Guru and follows his teachings, revered fear of God wells up within and she becomes a woman of high social status.
ਜਿਸਨੂੰਸਤਿਗੁਰੂਮਿਲਣਦੇਰਾਹੀਂਅੰਦਰਪਰਮਾਤਮਾਦਾਡਰਪੈਦਾਹੁੰਦਾਹੈ, ਉਹਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਕੁਲਵੰਤੀਹੋਜਾਂਦੀਹੈ।
جِسُستِگُرُمِلےَتِسُبھءُپۄےَساکُلۄنّتیِنارِ॥
بھو۔ خوف۔ سا۔ وہ ۔ کلونتی ۔ خاندانی ۔ حکم پچھانے ۔ الہٰی رضا سمجھے ۔
جسکا ملاپ مرشد سے ہوجاتاہے اس کے دل میں الہٰی خوف پیدا ہوجاتا ہے

ਸਾਹੁਕਮੁਪਛਾਣੈਕੰਤਕਾਜਿਸਨੋਕ੍ਰਿਪਾਕੀਤੀਕਰਤਾਰਿ॥
saa hukam pachhaanai kant kaa jis no kirpaa keetee kartaar.
The soul-bride, on whom the Creator has bestowed mercy, understand the command of Husband-God.
ਜਿਸਤੇਕਰਤਾਰਨੇਆਪਮਿਹਰਕੀਤੀਹੋਵੇ, ਉਹਖਸਮ-ਪ੍ਰਭੂਦਾਹੁਕਮਸਮਝਲੈਂਦੀਹੈ।
ساہُکمُپچھانھےَکنّتکاجِسنوک٘رِپاکیِتیِکرتارِ॥
کنت ۔ خاوند۔ کرتار۔ کرنے والا۔ کار ساز۔
اسے الہٰی رضا کی سمجھ آجاتی ہے جس پر خدا خؤد مہربان ہوتا ہے ۔

ਓਹਕੁਚਜੀਕੁਲਖਣੀਪਰਹਰਿਛੋਡੀਭਤਾਰਿ॥
oh kuchjee kulkhanee parhar chhodee bhataar.
The soul-bride whom Husband-God has not blessed, is considered unvirtuous and ill-mannered .
ਜਿਸਨੂੰਖਸਮ-ਪ੍ਰਭੂਨੇਛੱਡਦਿੱਤਾਹੋਵੇ, ਉਹਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਕੁਚੱਜੀਤੇਖੋਟੇਲੱਛਣਾਂਵਾਲੀਹੁੰਦੀਹੈ।
اوہکُچجیِکُلکھنھیِپرہرِچھوڈیِبھتارِ॥
کچجی ۔ بغیر سلیقے و طریقے ۔ کلکھنی ۔ برے خاندان والی ۔ پر ہر چھوڈی بھتار۔ خاوند کی طالقہ شدہ ۔
وہ خاندن کی طلاقہ شدہ بد چلن بد ضن جسے نہ سلیقہ آتا ہے نہ طرز زندگی بد کردار ہے ۔

ਭੈਪਇਐਮਲੁਕਟੀਐਨਿਰਮਲਹੋਵੈਸਰੀਰੁ॥
bhai pa-i-ai mal katee-ai nirmal hovai sareer.
When revered fear of God is enshrined in the heart, then the dirt of sins is washed off from the mind and body becomes immaculate.
ਜੇਹਿਰਦੇਵਿਚਪ੍ਰਭੂਦਾਡਰਆਵੱਸੇ, ਤਾਂਮਨਦੀਮੈਲਕੱਟੀਜਾਂਦੀਹੈ, ਸਰੀਰਭੀਪਵਿੱਤ੍ਰਹੋਜਾਂਦਾਹੈ;
بھےَپئِئےَملُکٹیِئےَنِرملہوۄےَسریِرُ॥
بھے پایئے مل گٹیئے ۔ الہٰی خوف سے بدیوں ۔ گناہوںبدکاریوں کی غلاظتمٹ جاتی ہے ۔ نرمل۔ بلا غلاظت ۔ پاک۔
اگر دل میں الہٰی خوف بس جائے تو قلب صاف ہوجاتاہےانسانی جسم پاک و پائس ہوجاتا ہے ذہنی غلاظت ختم ہوجاتی ہے ۔

ਅੰਤਰਿਪਰਗਾਸੁਮਤਿਊਤਮਹੋਵੈਹਰਿਜਪਿਗੁਣੀਗਹੀਰੁ॥
antar pargaas mat ootam hovai har jap gunee gaheer.
The mind is illuminated with divine wisdom and intellect becomes sublime by remembering God, the treasure of virtues.
ਗੁਣਾਂਦੇਖ਼ਜ਼ਾਨੇਪਰਮਾਤਮਾਦਾਸਿਮਰਨਕਰਕੇਅੰਦਰਚਾਨਣਹੋਜਾਂਦਾਹੈ, ਮਤਿਉੱਜਲੀਹੋਜਾਂਦੀਹੈ।
انّترِپرگاسُمتِاوُتمہوۄےَہرِجپِگُنھیِگہیِرُ॥
انتر پرگاس۔ دل روشن ۔ مت اتم۔ بلند ہوش و سمجھ ۔ گنی گہیر ۔ ۔ ویسے ۔ خو ف میں زندگی گذارے ۔
دل نورانی اور روشن ہوجاتا ہے ۔ جب انسان کے دل پر الہٰی خوف طاری ہوجاتا ہے ۔ریاض و یاد سے سمجھ و ہوش پاک اور بلند ہوجاتی ہے

ਭੈਵਿਚਿਬੈਸੈਭੈਰਹੈਭੈਵਿਚਿਕਮਾਵੈਕਾਰ॥
bhai vich baisai bhai rahai bhai vich kamaavai kaar.
Such a soul bride remains in the revered fear of God, and performs her worldly duties in the fear of God.
(ਅਜੇਹੀਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀ) ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਡਰਵਿਚਬੈਠਦੀਹੈ, ਡਰਵਿਚਰਹਿੰਦੀਹੈ, ਡਰਵਿਚਕਿਰਤਕਾਰਕਰਦੀਹੈ,
بھےَۄِچِبیَسےَبھےَرہےَبھےَۄِچِکماۄےَکار॥
بھے وچ کماوے ۔ کار ۔ خوف میں ۔ کام کرے
۔وہ اپنے اعمال اور کار خوف خدامیں کرتا ہے

ਐਥੈਸੁਖੁਵਡਿਆਈਆਦਰਗਹਮੋਖਦੁਆਰ॥
aithai sukh vadi-aa-ee-aa dargeh mokhdu-aar.
Such a soul bride enjoys peace and glory here in this world and her she reaches God’s presence free of vices.
ਉਸਨੂੰਇਸਜੀਵਨਵਿਚਆਦਰਤੇਸੁਖਮਿਲਦਾਹੈਤੇਪ੍ਰਭੂਦੀਹਜ਼ੂਰੀਦਾਦਰਵਾਜ਼ਾਉਸਲਈਖੁਲ੍ਹਜਾਂਦਾਹੈ।
ایَتھےَسُکھُۄڈِیائیِیادرگہموکھدُیار॥
۔ ہتھے سکھ ۔ اس عالممیں آرام و آسائش ۔ ڈویائیا۔ عظمت و شہرت ۔ درگیہہ موکھ دوآر۔ بارگاہ الہٰی مین نجات۔ آزادی ۔
اسے اس عالم میں آرام و آسائش اور الہٰی دربار کا دروازہ اس کے لئے کھل جاتا ہے اسے مکمل ازادی حاصل ہوجاتی ہے ۔

ਭੈਤੇਨਿਰਭਉਪਾਈਐਮਿਲਿਜੋਤੀਜੋਤਿਅਪਾਰ॥
bhai tay nirbha-o paa-ee-ai mil jotee jot apaar.
God, who is without any fear, is realized by remaining in His revered fear and one’s soul merges with the supreme Light.
ਪ੍ਰਭੂਦੇਡਰਵਿਚਰਹਿਣਨਾਲਨਿਡਰਪ੍ਰਭੂਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈਅਤੇਪ੍ਰਾਣੀਦਾਨੂਰ, ਅਨੰਤਨੂਰਅੰਦਰਲੀਨਹੋਜਾਂਦਾਹੈ।
بھےَتےنِربھءُپائیِئےَمِلِجوتیِجوتِاپار॥
لہذا الہٰی خوف سے بیخوفی اور بیخوف زندگی ملتی ہے۔ الہٰی نور جو از حد اور بیشمار ہے سے روحانی نور کے ملنے سے اس کے خوف میں زندگی گذارنے سے بیخوف خدا کا ملاپ و اصل نصیب ہوتا ہے

ਨਾਨਕਖਸਮੈਭਾਵੈਸਾਭਲੀਜਿਸਨੋਆਪੇਬਖਸੇਕਰਤਾਰੁ॥੧॥
naanak khasmai bhaavai saa bhalee jis no aapay bakhsay kartaar. ||1||
O’ Nanak, that soul-bride whom the Creator Himself blesses, is the most virtuous and pleasing to the Husband-God. ||1||
ਹੇਨਾਨਕ! ਜਿਸਨੂੰਕਰਤਾਰਆਪਬਖ਼ਸ਼ਸ਼ਕਰੇਉਹੀਜੀਵ-ਇਸਤ੍ਰੀਖਸਮ-ਪ੍ਰਭੂਨੂੰਪਿਆਰੀਲੱਗਦੀਹੈ, ਉਹਚੰਗੀਹੈ॥੧॥
نانککھسمےَبھاۄےَسابھلیِجِسنوآپےبکھسےکرتارُ॥੧॥
مگر اے نانک جسے کار ساز کرتار خود اپنی کرم عنایت و رحمت کرتا ہے وہی الہٰی محبوب بناتاہے ۔

ਮਃ੩॥
mehlaa 3.
Third Guru:
مਃ੩॥

ਸਦਾਸਦਾਸਾਲਾਹੀਐਸਚੇਕਉਬਲਿਜਾਉ॥
sadaa sadaa salaahee-ai sachay ka-o bal jaa-o.
We should praise God forever and ever; I dedicate myself to God.
ਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਪ੍ਰਭੂਦੀਹੀਸਦਾਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਕਰਨੀਚਾਹੀਦੀਹੈ, ਮੈਂਪ੍ਰਭੂਤੋਂਸਦਕੇਹਾਂ।
سداسداسالاہیِئےَسچےکءُبلِجاءُ॥
قربان ہوں صدقے جاتا ہوں اس پاک خدا پر اس صدیوی خدا کی حمدوثناہ کرنی چاہیے ۔

ਨਾਨਕਏਕੁਛੋਡਿਦੂਜੈਲਗੈਸਾਜਿਹਵਾਜਲਿਜਾਉ॥੨॥
naanak ayk chhod doojai lagai saa jihvaa jal jaa-o. ||2||
O’ Nanak, may that tongue get burnt down which renounces God and attaches itself to the praises of another. ||2||
ਪਰ, ਹੇਨਾਨਕ! ਉਹਜੀਭਸੜਜਾਏਜੋਇਕਪ੍ਰਭੂਨੂੰਛੱਡਕੇਕਿਸੇਹੋਰ (ਦੀਯਾਦ) ਵਿਚਲੱਗੇ॥੨॥
نانکایکُچھوڈِدوُجےَلگےَساجِہۄاجلِجاءُ॥੨॥
اے نانک۔ وہ زبان جل جائے جو واحد خدا کی چھوڑ کر دوسروں سے محبت کرتی ہے ۔

ਪਉੜੀ॥
pa-orhee.
Pauree:
پئُڑیِ॥

ਅੰਸਾਅਉਤਾਰੁਉਪਾਇਓਨੁਭਾਉਦੂਜਾਕੀਆ॥
ansaa a-utaar upaa-i-on bhaa-o doojaa kee-aa.
It is God Himself created angels likeAnsha and He also created the love for Maya.
ਦੇਵਤੇਆਦਿਕਾਂਦਾ (ਭੀ) ਜਨਮਪ੍ਰਭੂਨੇਆਪਹੀਕੀਤਾਤੇਮਾਇਆਦਾਮੋਹਭੀਆਪਹੀਬਣਾਇਆ।
انّساائُتارُاُپائِئونُبھاءُدوُجاکیِیا॥
انسا۔ جز۔ حصہ ۔ دتار۔ بنتی ۔ لولی ۔ اولیا۔ اپائن ۔ پیدا کیتے ۔ بھاو دوجا کیا ۔ انہوں نے دنیاوی دولت سے پیار کیا۔
والی اللہ فرشتے خدا نے خو د پیدا کئے اور انہیں دنیاوی دولت کی محبت بھی خود ہی پیدا کی

ਜਿਉਰਾਜੇਰਾਜੁਕਮਾਵਦੇਦੁਖਸੁਖਭਿੜੀਆ॥
ji-o raajay raaj kamaavday dukh sukhbhirhee-aa.
Those angelskept ruling like kings and kept fighting with each other in sorrows and pleasures (ਉਹਦੇਵਤੇਭੀ) ਰਾਜਿਆਂਵਾਂਗਰਾਜਕਰਦੇਰਹੇਤੇਦੁੱਖਾਂਸੁਖਾਂਦੀਖ਼ਾਤਰਲੜਦੇਰਹੇ।
جِءُراجےراجُکماۄدےدُکھسُکھبھِڑیِیا॥
دکھ سکھ بڑھیا۔ آرام و آسائش و عذابکے لئےلڑتے جھگڑتے رہے ۔
مگر وہ بھی حکمرانوں کی طرح حکومتیں کرتے اور حکومت چلاتے رہے اور آرام و آسائش اور تکلیف و عذاب کے لئے لڑتے رہے

ਈਸਰੁਬ੍ਰਹਮਾਸੇਵਦੇਅੰਤੁਤਿਨ੍ਹ੍ਹੀਨਲਹੀਆ॥
eesar barahmaa sayvday anttinHee na lahee-aa.
The gods like Brahma and Shiva worshiped the almighty God but even they have not been able to find His limits
ਬ੍ਰਹਮਾਤੇਸ਼ਿਵ (ਵਰਗੇਵੱਡੇਦੇਵਤੇਪ੍ਰਭੂਨੂੰ)ਸਿਮਰਦੇਰਹੇਪਰਉਹਨਾਂਭੀਉਸਦਾਅੰਤਨਾਪਾਇਆ।
ایِسرُب٘رہماسیۄدےانّتُتِن٘ہ٘ہیِنلہیِیا॥
نہ ایسر برہما سیودے انت تنہی نہ لہیا۔ شوجی اور برہما کی پرستش کرتے ہیں مگر خدا کو نہیں سمجھ سکے ۔شوجی اور برہما ۔ نربھو
شوجی اور برہما کی لوگ پرستش کرتے ہیں مگر خدا کو وہ بھی نہیں سمجھ سکے ۔

ਨਿਰਭਉਨਿਰੰਕਾਰੁਅਲਖੁਹੈਗੁਰਮੁਖਿਪ੍ਰਗਟੀਆ॥
nirbha-o nirankaar alakh hai gurmukh pargatee-aa.
God is fearless, formless andindescribable; He becomes manifest to the Guru’s follower,
ਪਰਮਾਤਮਾਨਿ-ਡਰਹੈ, ਆਕਾਰ-ਰਹਿਤਹੈਤੇਲਖਿਆਨਹੀਂਜਾਸਕਦਾ, ਗੁਰਮੁਖਦੇਅੰਦਰਪਰਗਟਹੁੰਦਾਹੈ,
نِربھءُنِرنّکارُالکھُہےَگُرمُکھِپ٘رگٹیِیا॥
۔ بیخوف۔ نرنکار ۔ بلا آکار و حجم۔ الکھ ۔ بیشمار ۔ گورمکھ پر گٹئیا۔ مرشد کے وسیلے سے عبور میں آتا ہے
بیخوف بلاحجم و جسم و آکار شماراندازے اور حساب سے باہر ہے ۔ مرید مرشد اسے ظہور میں لاتا ہے

ਤਿਥੈਸੋਗੁਵਿਜੋਗੁਨਵਿਆਪਈਅਸਥਿਰੁਜਗਿਥੀਆ॥੧੯॥
tithai sog vijog na vi-aapa-ee asthir jag thee-aa. ||19||
in that state, the Guru’s follower does not experience any anxiety or separation from God and remains stable in the world uneffected by Maya.||19||
ਗੁਰਮੁਖਅਵਸਥਾਵਿਚਚਿੰਤਾਤੇ (ਪ੍ਰਭੂਨਾਲੋਂ) ਵਿਛੋੜਾਦਬਾਨਹੀਂਪਾਸਕਦੇ, ਗੁਰਮੁਖਜਗਤਵਿਚਮਾਇਆਦੇਮੋਹਵਲੋਂਅਡੋਲਰਹਿੰਦਾਹੈ॥੧੯॥
تِتھےَسوگُۄِجوگُنۄِیاپئیِاستھِرُجگِتھیِیا॥੧੯॥
۔ سوگ۔ غم۔ وجوگ۔ جدائی۔ علیحدگی ۔ وباہئی ۔ پیدا ہوتاہے ۔ استھر ۔ بلا لرزش ۔ مستقل ۔
اور مریدان مرشدہونے کی صورت میں غمی اور جدائی اثرا نداز نہیں ہو سکتی وہ عالممیں پر سکون مستقل مزاج اور سنجیدہ رہتا ہے ۔

ਸਲੋਕੁਮਃ੩॥
salok mehlaa 3.
Shalok, Third Guru:
سلوکُمਃ੩॥

ਏਹੁਸਭੁਕਿਛੁਆਵਣਜਾਣੁਹੈਜੇਤਾਹੈਆਕਾਰੁ॥
ayhu sabh kichh aavan jaan hai jaytaa hai aakaar.
All this visible form and expanse of the world is subject to change.
ਜਿਤਨਾਇਹਜਗਤਦਿੱਸਰਿਹਾਹੈਇਹਸਾਰਾਆਉਣਤੇਜਾਣਵਾਲਾਹੈ (ਭਾਵ, ਕਦੇਇਕੋਹਾਲਤਵਿਚਨਹੀਂਰਹਿੰਦਾ),
ایہُسبھُکِچھُآۄنھجانھُہےَجیتاہےَآکارُ॥
آکار۔ دنیاوی پھیلاؤ۔آون جان۔ مٹ جانے والا۔
اس عالم کا جہان کا اس میں جو کچ بھی ہے تمام آنےجانے والا ہے صدیوی نہیں نا پائیدار ہے ۔

ਜਿਨਿਏਹੁਲੇਖਾਲਿਖਿਆਸੋਹੋਆਪਰਵਾਣੁ॥
jin ayhu laykhaa likhi-aa so ho-aa parvaan.
One, who understands this fact, is approved in God’s presence.
ਜੋਇਹਗੱਲਸਮਝਲੈਂਦਾਹੈ, ਉਹ (ਪ੍ਰਭੂਦੀਹਜ਼ੂਰੀਵਿਚ) ਕਬੂਲਹੁੰਦਾਹੈ।
جِنِایہُلیکھالِکھِیاسوہویاپرۄانھُ॥
جن۔ جسنے ۔ پروان۔ منظور۔ آپ گنایندا۔ خودی یا اپنی ہستی کا غرور کرتا ہے ۔ سو۔ وہ ۔
جس نے اس بات کو سمجھ لیا وہ منظور خدا ہو گیا

ਨਾਨਕਜੇਕੋਆਪੁਗਣਾਇਦਾਸੋਮੂਰਖੁਗਾਵਾਰੁ॥੧॥
naanak jay ko aap ganaa-idaa so moorakh gaavaar. ||1||
O’ Nanak, anyone who takes pride in himself is foolish and unwise. ||1||
ਪਰ, ਹੇਨਾਨਕ! ਜੋਇਸ ‘ਆਕਾਰ’ ਦੇਆਸਰੇਆਪਣੇਆਪਨੂੰਵੱਡਾਅਖਵਾਂਦਾਹੈਭਾਵ, ਮਾਣਕਰਦਾਹੈਉਹਮੂਰਖਹੈਗਵਾਰਹੈ॥੧॥
نانکجےکوآپُگنھائِداسوموُرکھُگاۄارُ॥੧॥
مورکھ ۔ بیوقوف ۔ گوار۔ جاہل۔
۔ مگر اے ناک جو اپنے آپ پر ناز کرتا ہے وہ بیوقوف اور جاہل ہے ۔

ਮਃ੩॥
mehlaa 3.
Third Guru:
مਃ੩॥

ਮਨੁਕੁੰਚਰੁਪੀਲਕੁਗੁਰੂਗਿਆਨੁਕੁੰਡਾਜਹਖਿੰਚੇਤਹਜਾਇ॥
man kunchar peelak guroo gi-aan kundaa jah khinchay tah jaa-ay.
Consider the mind like an elephant, the Guru like the controller and teachings of the Guru like the goad; then in whatever direction the goad of the Guru’s teachings pulls it, the mind-elephant would go.
ਮਨ (ਮਾਨੋ) ਹਾਥੀਹੈ; (ਜੇ) ਸਤਿਗੁਰੂ (ਇਸਦਾ) ਮਹਾਵਤ (ਬਣੇ, ਤੇ) ਗੁਰੂਦੀਦਿੱਤੀਮਤਿ (ਇਸਦੇਸਿਰਤੇ) ਕੁੰਡਾਹੋਵੇ, ਤਾਂਇਹਮਨਓਧਰਜਾਂਦਾਹੈਜਿਧਰਗੁਰੂਤੋਰਦਾਹੈ।
منُکُنّچرُپیِلکُگُروُگِیانُکُنّڈاجہکھِنّچےتہجاءِ॥
کنچر۔ ہاتھی ۔ گرو ۔ مرشد۔ پیلک ۔ مہاوت۔ گیان ۔ علم ۔ کنڈا۔ انکس۔ جیہہ کھنچے تیہہ جائے ۔ جہاں کھنچتا ہے ۔ وہاں جاتا ہے
من ایک ہاتھی جیسا ہے اور مرشد اس من ہاتھی کے لئے مہاوت علم سمجھ انکس تب یہ من اس راہ پر چلتا ہے جہاں مرشد چلاتا ہے

ਨਾਨਕਹਸਤੀਕੁੰਡੇਬਾਹਰਾਫਿਰਿਫਿਰਿਉਝੜਿਪਾਇ॥੨॥
naanak hastee kunday baahraa fir fir ujharh paa-ay. ||2||
O’ Nanak, without the goad of the Guru’s teachings, the elephant like mind repeatedly goes astray. ||2||
ਹੇਨਾਨਕ! ਕੁੰਡੇਤੋਂਬਿਨਾਹਾਥੀਮੁੜਮੁੜਕੁਰਾਹੇਪੈਂਦਾਹੈ॥੨॥
نانکہستیِکُنّڈےباہراپھِرِپھِرِاُجھڑِپاءِ॥੨॥
کنڈے باہر۔ بغیر انکس۔ ضبط۔ ۔ اوجھڑ۔ غلط راستے ۔
۔مگر اے نانک۔ ۔ جیسےا نکس کے بغیر ہاتھی دوبارہ دوبارہ غلط رہا پر چلتاہے ایسے ہی انسانی من کا حال ہے ۔

ਪਉੜੀ॥
pa-orhee.
Pauree:
پئُڑیِ॥

ਤਿਸੁਆਗੈਅਰਦਾਸਿਜਿਨਿਉਪਾਇਆ॥
tis aagai ardaas jin upaa-i-aa.
If we pray before God who has created the love for duality,
ਜਿਸਪ੍ਰਭੂਨੇ (ਭਾਉਦੂਜਾ) ਪੈਦਾਕੀਤਾਹੈਜੇਉਸਦੀਹਜ਼ੂਰੀਵਿਚਅਰਦਾਸਕਰੀਏ,
تِسُآگےَارداسِجِنِاُپائِیا॥
ارداس۔ گذارش ۔ اپائیا۔ پیدا کیا ۔ زندگی عنایت فرمائی ۔
گذارش ہے اس سے جس نے پیدا کی ہے ۔