Urdu-Raw-Page-480

ਜਮਕਾਡੰਡੁਮੂੰਡਮਹਿਲਾਗੈਖਿਨਮਹਿਕਰੈਨਿਬੇਰਾ॥੩॥
jam kaa dand moond meh laagai khin meh karai nibayraa. ||3||
But when the demon of death strikes the head, everything is settled in an instant (that the wealth doesn’t belong to the mortal at all).||3||
(ਪਰਜਿਸਵੇਲੇ) ਜਮਦਾਡੰਡਾਸਿਰਤੇਆਵੱਜਦਾਹੈਤਦੋਂਇਕਪਲਕਵਿਚਫ਼ੈਸਲਾਕਰਦੇਂਦਾਹੈਕਿਇਹਧਨਕਿਸੇਦਾਭੀਨਹੀਂ॥੩॥
جمکاڈنّڈُموُنّڈمہِلاگےَکھِنمہِکرےَنِبیرا॥੩॥
کاہو ۔ کسے ۔ دینے ۔ دیتا ہے ۔ پات پٹنیر۔ ریشمی کپڑے ۔
یہ دولت میری ہے مگرموت کی لاٹھی سر پر پڑتی ہے اور فیصلہ ہوجاتا کہ یہ کسی کا نہیں (3)

ਹਰਿਜਨੁਊਤਮੁਭਗਤੁਸਦਾਵੈਆਗਿਆਮਨਿਸੁਖੁਪਾਈ॥
har jan ootam bhagat sadaavai aagi-aa man sukh paa-ee.
God’s servant derives inner pleasure out of obeying His will and in the world, he is known as an exalted saint.
ਜੋਮਨੁੱਖਪ੍ਰਭੂਦਾਸੇਵਕਹੈ, ਉਹਪ੍ਰਭੂਦਾਹੁਕਮਮੰਨਕੇਸੁਖਮਾਣਦਾਹੈਤੇਜਗਤਵਿਚਨੇਕਭਗਤਸਦਾਂਦਾਹੈ (ਭਾਵ, ਸੋਭਾਪਾਂਦਾਹੈ),
ہرِجنُاوُتمُبھگتُسداۄےَآگِیامنِسُکھُپائیِ॥
ہر جن ۔ الہٰی خادم۔ اوتم ۔ بند عطمت ۔ بھگت ۔ الہٰی عاشق
اور لوگوں میں نیک اور پریمی کہلاتا ہے عطمت و شہرت پاتا ہے اور فرمانبرداری سے سکون پاتا ہے

ਜੋਤਿਸੁਭਾਵੈਸਤਿਕਰਿਮਾਨੈਭਾਣਾਮੰਨਿਵਸਾਈ॥੪॥
jo tis bhaavai sat kar maanai bhaanaa man vasaa-ee. ||4||
He accepts God’s Will as True and he enshrines that Will in his heart. ||4||
ਪ੍ਰਭੂਦੀਰਜ਼ਾਮਨਵਿਚਵਸਾਂਦਾਹੈ, ਜੋਪ੍ਰਭੂਨੂੰਭਾਂਦਾਹੈਉਸੇਨੂੰਹੀਠੀਕਸਮਝਦਾਹੈ॥੪॥
جوتِسُبھاۄےَستِکرِمانےَبھانھامنّنِۄسائیِ॥੪॥
۔بھاوے ۔ رجا۔ ست۔ سچ ۔ بھانا۔ من وسائی ۔ رجا ۔ دلمیں بسائے
جو الہٰی رضا فرمانبرداری دلمیں بساتاہے اور اسے ہی ٹھیک سمجھتا ہے (4)

ਕਹੈਕਬੀਰੁਸੁਨਹੁਰੇਸੰਤਹੁਮੇਰੀਮੇਰੀਝੂਠੀ॥
kahai kabeer sunhu ray santahu mayree mayree jhoothee.
Says Kabeer, “Listen O’ Saints, it is false to claim that this is mine or that is mine, because nothing stays yours forever”.
ਕਬੀਰਕਹਿੰਦਾਹੈ-ਹੇਸੰਤਜਨੋ! ਸੁਣੋ, “ਇਹਧਨਪਦਾਰਥਆਦਿਕਮੇਰਾਹੈ”-ਇਹਖ਼ਿਆਲਕੂੜਾਹੈ (ਭਾਵ, ਦੁਨੀਆਦੇਪਦਾਰਥਾਂਵਾਲੀਅਪਣੱਤਸਦਾਨਹੀਂਰਹਿਸਕਦੀ);
کہےَکبیِرُسُنہُرےسنّتہُمیریِمیریِجھوُٹھیِ॥
کبیر جی فرماتے ہیں اے سنت جنہو ں سنہو یہ بالکل جھوٹ ہے جو کہتے ہیں کہ دولت سرمایہ میرا ہے

ਚਿਰਗਟਫਾਰਿਚਟਾਰਾਲੈਗਇਓਤਰੀਤਾਗਰੀਛੂਟੀ॥੫॥੩॥੧੬॥
chirgat faar chataaraa lai ga-i-o taree taagree chhootee. ||5||3||16||
Just as tearing down the bird-cage, if cat takes the birdy away and leaves all its food and water behind, death takes away one’s soul leaving all his possessions behind. ||5||3||16||
(ਜਿਵੇਂ, ਜੇ) ਪਿੰਜਰੇਨੂੰਪਾੜਕੇ (ਕੋਈਬਿੱਲਾ) ਚਿੜੇਨੂੰਫੜਕੇਲੈਜਾਏਤਾਂ (ਉਸਪਿੰਜਰੇ-ਪਏਪੰਛੀਦੀ) ਕੁੱਜੀਤੇਠੂਠੀਧਰੀਹੀਰਹਿਜਾਂਦੀਹੈ (ਤਿਵੇਂ, ਮੌਤਆਇਆਂਬੰਦੇਦੇਖਾਣ-ਪੀਣਵਾਲੇਪਦਾਰਥਇਥੇਹੀਧਰੇਰਹਿਜਾਂਦੇਹਨ) ॥੫॥੩॥੧੬॥
چِرگٹپھارِچٹارالےَگئِئوتریِتاگریِچھوُٹیِ॥੫॥੩॥੧੬॥
چرغت ۔ پنجر ۔ پھار ۔توڑ کر ۔ چتارا۔ چڑا۔ تری تاگری ۔ کجی موھو ٹھی
جیسے بلی پنجر توڑ کر چری پکڑ کر لیجاتی ہے اور اسے دانہ اور پانی کے لئے کجی اورٹھوٹھی دھری دھرائی رہ جاتی ہے ایسا ہی انسان کے لئے بھی ہے ۔

ਆਸਾ॥
aasaa.
Raag Aasaa:
آسا॥

ਹਮਮਸਕੀਨਖੁਦਾਈਬੰਦੇਤੁਮਰਾਜਸੁਮਨਿਭਾਵੈ॥
ham maskeen khudaa-ee banday tum raajas man bhaavai.
O’ Qazi, we are but humble servants of God and are all created equal by the same creator. You pride in ruling people with oppression.
(ਹੇਕਾਜ਼ੀ!) ਅਸੀਂਤਾਂਆਜਜ਼ਲੋਕਹਾਂ, ਪਰਹਾਂ (ਅਸੀਂਭੀ) ਰੱਬਦੇਪੈਦਾਕੀਤੇਹੋਏ।ਤੁਹਾਨੂੰਆਪਣੇਮਨਵਿਚਹਕੂਮਤਚੰਗੀਲੱਗਦੀਹੈ (ਭਾਵ, ਤੁਹਾਨੂੰਹਕੂਮਤਦਾਮਾਣਹੈ)।
ہممسکیِنکھُدائیِبنّدےتُمراجسُمنِبھاۄےَ॥
اے قاضی ہم خدا کے محض عاجز بندے ہیں اور سب کو ایک ہی خالق نے برابر پیدا کیا ہے۔ آپ لوگوں پر ظلم کرتے ہوئے فخر کرتے ہیں

ਅਲਹਅਵਲਿਦੀਨਕੋਸਾਹਿਬੁਜੋਰੁਨਹੀਫੁਰਮਾਵੈ॥੧॥
alah aval deen ko saahib jor nahee furmaavai. ||1||
However, the almighty God, the Master of the poor doesn’t permit anyone to rule by oppression. ||1||
ਮਜ਼ਹਬਦਾਸਭਤੋਂਵੱਡਾਮਾਲਕਤਾਂਰੱਬਹੈ, ਉਹ (ਕਿਸੇਉਤੇ) ਧੱਕਾਕਰਨਦੀਆਗਿਆਨਹੀਂਦੇਂਦਾ॥੧॥
الہاۄلِدیِنکوساہِبُجورُنہیِپھُرماۄےَ॥੧॥
تاہم ، اللہ تعالی ، غریبوں کا مالک ، کسی کو بھی اجازت نہیں دیتا کہکوئی جبر کے ذریعہ حکمرانی کرے

ਕਾਜੀਬੋਲਿਆਬਨਿਨਹੀਆਵੈ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
kaajee boli-aa ban nahee aavai. ||1|| rahaa-o.
O’ qazi, it doesn’t behove you to say what you are saying.||1||Pause||
ਹੇਕਾਜ਼ੀ! ਤੇਰੀਆਂ (ਜ਼ਬਾਨੀ) ਗੱਲਾਂਫਬਦੀਆਂਨਹੀਂ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
کاجیِبولِیابنِنہیِآۄےَ॥੧॥رہاءُ॥
اے قاضی تیری زبان باتیں جائیز اور مناسب نہیں ہیں (1)

ਰੋਜਾਧਰੈਨਿਵਾਜਗੁਜਾਰੈਕਲਮਾਭਿਸਤਿਨਹੋਈ॥
rojaa Dharai nivaaj gujaarai kalmaa bhisat na ho-ee.
Only by observing fasts, reciting your prayers and reading the Kalma (the holy word of Islamic creed) shall not take you to paradise.
(ਨਿਰਾ) ਰੋਜ਼ਾਰੱਖਿਆਂ, ਨਿਮਾਜ਼ਪੜ੍ਹਿਆਂਤੇਕਲਮਾਆਖਿਆਂਭਿਸ਼ਤਨਹੀਂਮਿਲਜਾਂਦਾ।
روجادھرےَنِۄاجگُجارےَکلمابھِستِنہوئیِ॥
صر ف روضہ رکھنے اور نماز ادا کرنے اورکلمے سے بہشت نہیں مل سکتی

ਸਤਰਿਕਾਬਾਘਟਹੀਭੀਤਰਿਜੇਕਰਿਜਾਨੈਕੋਈ॥੨॥
satar kaabaa ghat hee bheetar jay kar jaanai ko-ee. ||2||
The abode of God, the hidden Kabba (The Temple of Mecca) is within you if you could only know it. ||2||
ਰੱਬਦਾਗੁਪਤਘਰਤਾਂਮਨੁੱਖਦੇਦਿਲਵਿਚਹੀਹੈ, (ਪਰਲੱਭਦਾਤਾਂਹੀਹੈ) ਜੇਕੋਈਸਮਝਲਏ॥੨॥
سترِکاباگھٹہیِبھیِترِجےکرِجانےَکوئیِ॥੨॥
انسانی دل کے اندر خدا کا گھر اور کعبہ ہےپتہ مگر اسے ہے جو سمجھ لے (2)

ਨਿਵਾਜਸੋਈਜੋਨਿਆਉਬਿਚਾਰੈਕਲਮਾਅਕਲਹਿਜਾਨੈ॥
nivaaj so-ee jo ni-aa-o bichaarai kalmaa aklahi jaanai.
O’ qazi, only the one who practices justice, says the True ‘Namaaz’, and the one who recognizes God with wisdom is reading ‘Kalmaa’ ( word of Islamic Creed).
ਜੋਮਨੁੱਖਨਿਆਂਕਰਦਾਹੈਉਹ (ਮਾਨੋ) ਨਿਮਾਜ਼ਪੜ੍ਹਰਿਹਾਹੈ, ਤੇਜੇਰੱਬਨੂੰਅਕਲਨਾਲਪਛਾਣਦਾਹੈਤਾਂਕਲਮਾਆਖਰਿਹਾਹੈ;
نِۄاجسوئیِجونِیاءُبِچارےَکلمااکلہِجانےَ॥
نما ز اسی کی ہے منظور کدا جو انصاف کرتا ہے جسے ہوش و عقل سے خدا کی پہچان ہے تب سمجھو وہ کلمہ بیان کر رہا ہے ۔

ਪਾਚਹੁਮੁਸਿਮੁਸਲਾਬਿਛਾਵੈਤਬਤਉਦੀਨੁਪਛਾਨੈ॥੩॥
paachahu mus muslaa bichhaavai tab ta-o deen pachhaanai. ||3||
One who controls all the five impulses (lust, anger, greed, attachment and ego) spreads ‘Musalla’ (the prayer mat) and understands the religion.||3||
ਕਾਮਾਦਿਕਪੰਜ (ਬਲੀਵਿਕਾਰਾਂ) ਨੂੰਜੇਆਪਣੇਵੱਸਵਿਚਕਰਦਾਹੈਤਾਂ (ਮਾਨੋ) ਮੁਸੱਲਾਵਿਛਾਂਦਾਹੈ, ਤੇਮਜ਼ਹਬਨੂੰਪਛਾਣਦਾਹੈ॥੩॥
پاچہُمُسِمُسلابِچھاۄےَتبتءُدیِنُپچھانےَ॥੩॥
جو پانچوں بد احساسات بد پر ضبط حاسل کرنا مصلا بچھانا ہے یہی مذہب کی پہچان ہے

ਖਸਮੁਪਛਾਨਿਤਰਸਕਰਿਜੀਅਮਹਿਮਾਰਿਮਣੀਕਰਿਫੀਕੀ॥
khasam pachhaan taras kar jee-a meh maar manee kar feekee.
O’ Qazi, recognize the true Master-God, have compassion for all creatures in your heart and shed ego deeming it as insipid.
ਹੇਕਾਜ਼ੀ! ਮਾਲਕਪ੍ਰਭੂਨੂੰਪਛਾਣ, ਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚਪਿਆਰਵਸਾ, ਮਣੀਨੂੰਫਿੱਕੀਜਾਣਕੇਮਾਰ (ਹੰਕਾਰਨੂੰਮਾੜਾਜਾਣਕੇਦੂਰਕਰ)।
کھسمُپچھانِترسکرِجیِءمہِمارِمنھیِکرِپھیِکیِ॥
اے قاضی خدا کی پہچان کر دل میں انسانی صحبت بسا ۔ اور غرور و تکبر وقار کا خیال چھوڑ

ਆਪੁਜਨਾਇਅਵਰਕਉਜਾਨੈਤਬਹੋਇਭਿਸਤਸਰੀਕੀ॥੪॥
aap janaa-ay avar ka-o jaanai tab ho-ay bhisat sareekee. ||4||
When you see others as you see yourself, only then will you become worthy of going to heaven. ||4||
ਜਦੋਂਮਨੁੱਖਆਪਣੇਆਪਨੂੰਸਮਝਾਕੇਦੂਜਿਆਂਨੂੰ (ਆਪਣੇਵਰਗਾ) ਸਮਝਦਾਹੈ, ਤਦਭਿਸ਼ਤਦਾਭਾਈਵਾਲਬਣਦਾਹੈ॥੪॥
آپُجناءِاۄرکءُجانےَتبہوءِبھِستسریِکیِ॥੪॥
جب انسان پہلے اپنے آپ کو سمجھائے تبہی دوسروں کی سمجھ آتیہے ۔ تب ہی بہشت مین شراکت حاصل ہوتی ہے (4)

ਮਾਟੀਏਕਭੇਖਧਰਿਨਾਨਾਤਾਮਹਿਬ੍ਰਹਮੁਪਛਾਨਾ॥
maatee ayk bhaykhDhar naanaa taa meh barahm pachhaanaa.
(O’ qazi) It is the same clay, which has been shaped into countless forms (of creatures). I have recognized the one God in them all.
ਮਿੱਟੀਇਕੋਹੀਹੈ, (ਪ੍ਰਭੂਨੇਇਸਦੇ) ਅਨੇਕਾਂਵੇਸਧਾਰੇਹੋਏਹਨ। (ਅਸਲਮੋਮਨਨੇ) ਇਹਨਾਂ (ਵੇਸਾਂ) ਵਿਚਰੱਬਨੂੰਪਛਾਣਿਆਹੈ (ਤੇਇਹੀਹੈਭਿਸ਼ਤਦਾਰਾਹ);
ماٹیِایکبھیکھدھرِناناتامہِب٘رہمُپچھانا॥
مٹی سب کے لئے ایک ہی ہے مگر شکلیں علیحدہ علیحدہ بنائی ہیں ان سب میں الہٰی نور بستا ہے نظر اتا ہے

ਕਹੈਕਬੀਰਾਭਿਸਤਛੋਡਿਕਰਿਦੋਜਕਸਿਉਮਨੁਮਾਨਾ॥੫॥੪॥੧੭॥
kahai kabeeraa bhisatchhod kar dojak si-o man maanaa. ||5||4||17||
Kabeer says, you have abandoned the path of paradise, and reconciled with being in hell by taking the path of oppression on others. ||5||4||17||
ਪਰ, ਕਬੀਰਆਖਦਾਹੈ, (ਹੇਕਾਜ਼ੀ!) ਤੁਸੀਤਾਂ (ਦੂਜਿਆਂਉੱਤੇਜੋਰ-ਧੱਕਾਕਰਕੇ) ਭਿਸ਼ਤ (ਦਾਰਸਤਾ) ਛੱਡਕੇਦੋਜ਼ਕਨਾਲਮਨਜੋੜੀਬੈਠੇਹੋ॥੫॥੪॥੧੭॥
کہےَکبیِرابھِستچھوڈِکرِدوجکسِءُمنُمانا॥੫॥੪॥੧੭॥
کبیر کہتے ہیں ، آپ نے جنت کی راہ ترک کردی ہے ، اور دوسروں پر ظلم کا راستہ اختیار کرکے جہنم میں رہنے سے صلح کی ہے

ਆਸਾ॥
aasaa.
Raag Aasaa:
آسا॥

ਗਗਨਨਗਰਿਇਕਬੂੰਦਨਬਰਖੈਨਾਦੁਕਹਾਜੁਸਮਾਨਾ॥
gagan nagar ik boond na barkhai naad kahaa jo samaanaa.
O’ God where is gone the attachment of Maya? (The noise of worldly attachments has left my mind). Now, I am calm and at peace.
ਹੇਬਾਬਾ! ਸਰੀਰਕਮੋਹਆਦਿਕਦਾਉਹਰੌਲਾਕਿੱਥੇਗਿਆ (ਜੋਹਰਵੇਲੇਤੇਰੇਮਨਵਿਚਟਿਕਿਆਰਹਿੰਦਾਸੀ)? ਹੁਣਤਾਂਤੇਰੇਮਨਵਿਚਕੋਈਇੱਕਫੁਰਨਾਭੀਨਹੀਂਉਠਦਾ।
گگننگرِاِکبوُنّدنبرکھےَنادُکہاجُسمانا॥
¬¬¬ گگن ۔ ذہن۔ دماغ۔ اک بوند۔ ذرا بھر ۔ مراد ذہن میں
خدایا مایا کا پیار کہاں چلا گیا؟ (دنیاوی لگاؤ کے شور نے میرا دماغ چھوڑا ہے)۔ اب ، میں پر سکون ہوں اور سکون سے ہوں

ਪਾਰਬ੍ਰਹਮਪਰਮੇਸੁਰਮਾਧੋਪਰਮਹੰਸੁਲੇਸਿਧਾਨਾ॥੧॥
paarbarahm parmaysur maaDho param hans lay siDhaanaa. ||1||
This is all God’s blessing that He has cleared my mind of all worldly attachments. ||1||
(ਇਹਸਭਮਿਹਰ) ਉਸਪਾਰਬ੍ਰਹਮਪਰਮੇਸ਼ਰਮਾਧੋਪਰਮਹੰਸ (ਦੀਹੈਜਿਸ) ਨੇਮਨਦੇਇਹਸਾਰੇਮਾਇਕਸ਼ੋਰਨਾਸਕਰਦਿੱਤੇਹਨ॥੧॥
پارب٘رہمپرمیسُرمادھوپرمہنّسُلےسِدھانا॥੧॥
پار برہم۔پار گانے والا خدا۔ کامیابی عنایت کرنے والا۔ پرمیسور۔ عظیم روح۔ مادہو ۔ خدا ۔ پرم ہنس۔ بلند عظمت ۔ روھ۔ لے سدھانا۔ پرواز کر گئی
خداوند عالم ، ماورائے خدا ، دولت کے مالک نے اعلیٰ روح کو چھین لیا ہے

ਬਾਬਾਬੋਲਤੇਤੇਕਹਾਗਏਦੇਹੀਕੇਸੰਗਿਰਹਤੇ॥
baabaa boltay tay kahaa ga-ay dayhee kay sang rahtay.
O’ my friend, those thoughts about the worldly attachments used to make so much noise in my mind. Where are they gone now?
ਹੇਭਾਈ! (ਹਰਿ-ਸਿਮਰਨਦੀਬਰਕਤਨਾਲਤੇਰੇਅੰਦਰਅਚਰਜਤਬਦੀਲੀਪੈਦਾਹੋਗਈਹੈ) ਤੇਰੇਉਹਬੋਲ-ਬੁਲਾਰੇਕਿੱਥੇਗਏਜੋਸਦਾਸਰੀਰਸੰਬੰਧੀਹੀਰਹਿੰਦੇਸਨ?
بابابولتےتےکہاگۓدیہیِکےسنّگِرہتے॥
بولتے تھےدیہی کے سنگ رہتے۔ جو اس جسم کے ساتھی تھے

ਸੁਰਤਿਮਾਹਿਜੋਨਿਰਤੇਕਰਤੇਕਥਾਬਾਰਤਾਕਹਤੇ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
surat maahi jo nirtay kartay kathaa baartaa kahtay. ||1|| rahaa-o.
Those thoughts of attachment used to dance in the mind and talk about themselves alone. ||1||Pause||
ਕਦੇ (ਉਹਸਮਾਸੀਜਦੋਂ) ਤੇਰੀਆਂਸਾਰੀਆਂਗੱਲਾਂ-ਬਾਤਾਂਸਰੀਰਕਮੋਹਬਾਰੇਹੀਸਨ, ਤੇਰੇਮਨਵਿਚਮਾਇਕਫੁਰਨੇਹੀਨਾਚਕਰਦੇਸਨ-ਉਹਸਭਕਿਤੇਲੋਪਹੀਹੋਗਏਹਨ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
سُرتِماہِجونِرتےکرتےکتھابارتاکہتے॥੧॥رہاءُ॥
نرتے ۔ ناچتے تھے ۔ کتھا ۔ بارتا۔ کہانیاں بیاں کرتے تھے۔ سرت ماہے ۔ ہوش و حواس
تعلق کے وہ خیالات ذہن میں ناچتے تھے اور خود تنہا گفتگو کرتے تھے

ਬਜਾਵਨਹਾਰੋਕਹਾਗਇਓਜਿਨਿਇਹੁਮੰਦਰੁਕੀਨ੍ਹ੍ਹਾ॥
bajaavanhaaro kahaa ga-i-o jin ih mandar keenHaa.
The mind which was the thinker behind those thoughts is transformed and the thoughts about attachment to this body don’t arise any more.
(ਸਰੀਰਕਮੋਹਦੇਉਹਫੁਰਨੇਕਿੱਥੇਰਹਿਸਕਦੇਹਨ? ਹੁਣਤਾਂਉਹਮਨਹੀਨਹੀਂਰਿਹਾਜਿਸਮਨਨੇਸਰੀਰਕਮੋਹਦੀਇਹਢੋਲਕੀਬਣਾਈਹੋਈਸੀ।ਮਾਇਕਮੋਹਦੀਢੋਲਕੀਨੂੰ) ਵਜਾਣਵਾਲਾਉਹਮਨਹੀਕਿਤੇਲੋਪਹੋਗਿਆਹੈ।
بجاۄنہاروکہاگئِئوجِنِاِہُمنّدرُکیِن٘ہ٘ہا॥
جس نے یہ جسم ایک ڈھونک بنا رکھا تھاآب وہ دل ہی نہیں رہا کہا ں گیا۔ اب وہ ہوش و ہ کلام وہ خیال پیدا ہی نہیں ہوتے تمام برکت ضائع کر دی

ਸਾਖੀਸਬਦੁਸੁਰਤਿਨਹੀਉਪਜੈਖਿੰਚਿਤੇਜੁਸਭੁਲੀਨ੍ਹ੍ਹਾ॥੨॥
saakhee sabad surat nahee upjai khinch tayj sabh leenHaa. ||2||
No story, word or understanding of the previous kind is produced in the mind; God has drained off its energy which was responsible for generating those thoughts earlier. ||2||
(ਪਾਰਬ੍ਰਹਮਪਰਮੇਸਰਨੇਮਨਦਾਉਹਪਹਿਲਾ) ਤੇਜ-ਪ੍ਰਤਾਪਹੀਖਿੱਚਲਿਆਹੈ, ਮਨਵਿਚਹੁਣਉਹਪਹਿਲੀਗੱਲਪਹਿਲਾਬੋਲਪਹਿਲਾਫੁਰਨਾਕਿਤੇਪੈਦਾਹੀਨਹੀਂਹੁੰਦਾ॥੨॥
ساکھیِسبدُسُرتِنہیِاُپجےَکھِنّچِتیجُسبھُلیِن٘ہ٘ہا॥੨॥
سرت۔ ہوش۔ سبد نہیں اپجے ۔ بول پیدا نہیں ہوتے ۔ کھنچ تیج سب لینا۔ ساری طاقت نکال لی
کوئی کہانی ، لفظ یا تفہیم پیدا نہیں ہوتا ہے۔ خداوند نے تمام طاقت ختم کردی ہے۔

ਸ੍ਰਵਨਨਬਿਕਲਭਏਸੰਗਿਤੇਰੇਇੰਦ੍ਰੀਕਾਬਲੁਥਾਕਾ॥
saravnan bikal bha-ay sang tayray indree kaa bal thaakaa.
The ears, your companions have gone deaf and the power of your organs is exhausted.
ਤੇਰੇਉਹਕੰਨਕਿੱਥੇਗਏਜੋਪਹਿਲਾਂਸਰੀਰਕਮੋਹਵਿਚਫਸੇਹੋਏਸਦਾਵਿਆਕੁਲਰਹਿੰਦੇਸਨ? ਤੇਰੀਕਾਮ-ਚੇਸ਼ਟਾਦਾਜ਼ੋਰਭੀਰੁਕਗਿਆਹੈ।
س٘رۄننبِکلبھۓسنّگِتیرےاِنّد٘ریِکابلُتھاکا॥
سرونن ۔ کان ۔ بکل بھیئے ۔ سننے سے بیکار ہوگئے ۔ اندری کا بھل تھا کا ۔ اعضے جسمانی کی طاقت ختم ہوگئی ۔
اے انسان تیرے کان پریشان اور بیکار ہو گئے ہیں۔تیری شہوت سے محبت ختم ہوگئی ہے

ਚਰਨਰਹੇਕਰਢਰਕਿਪਰੇਹੈਮੁਖਹੁਨਨਿਕਸੈਬਾਤਾ॥੩॥
charan rahay kar dharak paray hai mukhahu na niksai baataa. ||3||
Your feet have failed and no words come out of your mouth.||3||
ਤੇਰੇਨਾਹਉਹਪੈਰਹਨ, ਨਾਹਉਹਹੱਥਹਨਜੋਦੇਹ-ਅੱਧਿਆਸਦੀਦੌੜ-ਭੱਜਵਿਚਰਹਿੰਦੇਸਨ।ਤੇਰੇਮੂੰਹਤੋਂਭੀਹੁਣਸਰੀਰਕਮੋਹਦੀਆਂਗੱਲਾਂਨਹੀਂਨਿਕਲਦੀਆਂਹਨ॥੩॥
چرنرہےکرڈھرکِپرےہےَمُکھہُننِکسےَباتا॥੩॥
چرن رہے ۔ پاوں چلنے سے رہ گئے ۔ کرڈہرک پرے ۔ ہاتھلڑھک گئے ۔ مکھو نہ نکسے یاتا۔ زبان سے آواز نہیں نکلتی
آپ کے پاؤں ناکام ہوگئے ہیں اور آپ کے منہ سے کوئی لفظ نہیں نکلا ہے

ਥਾਕੇਪੰਚਦੂਤਸਭਤਸਕਰਆਪਆਪਣੈਭ੍ਰਮਤੇ॥
thaakay panch doot sabhtaskar aap aapnai bharamtay.
Having grown weary, the five demonic thieves (the passions of lust, anger, greed, attachment and ego) are exhausted. They don’t wander around anymore to fulfill their motives.
ਕਾਮਾਦਿਕਤੇਰੇਪੰਜੇਵੈਰੀਹਾਰਚੁਕੇਹਨ, ਉਹਸਾਰੇਚੋਰਆਪੋਆਪਣੀਭਟਕਣਾਤੋਂਹਟਗਏਹਨ (ਕਿਉਂਕਿਜਿਸਮਨਦਾ) ਤੇਜਤੇਆਸਰਾਲੈਕੇ (ਇਹਪੰਜੇਕਾਮਾਦਿਕ) ਦੌੜ-ਭੱਜਕਰਦੇਸਨ।
تھاکےپنّچدوُتسبھتسکرآپآپنھےَبھ٘رمتے॥
تھا کے پنچ دوت ۔ پانچوں انسانیت یا اخلاق دشمن احساسات ختم ہوگئے ۔
) پانچوں اخلاق و انسانیت دشمن احساسات بد کی بھٹکن اور تگ و دو ختم ہوگئی ہے ۔ دل کی مگروری اور تکبر ختم ہوگیا ہے نہ دل ہی رہا ہے)دسوں اعضائے جسمانی کی جسمانی محبت ختم ہو چکی ہے

ਥਾਕਾਮਨੁਕੁੰਚਰਉਰੁਥਾਕਾਤੇਜੁਸੂਤੁਧਰਿਰਮਤੇ॥੪॥
thaakaa man kunchar ur thaakaa tayj sootDhar ramtay. ||4||
The elephant like nature of the mind has grown weary and the heart has grown weary as well; the power it was using to pull the strings has gone down. ||4||
ਉਹਮਨ-ਹਾਥੀਹੀਨਹੀਂਰਿਹਾ, ਉਹਹਿਰਦਾਹੀਨਹੀਂਰਿਹਾ॥੪॥
تھاکامنُکُنّچراُرُتھاکاتیجُسوُتُدھرِرمتے॥੪॥
کنچر۔ دل جو تکبر بھر اتھا۔ سوت دھار۔ جس کے ہاتھ میں انسانی اعمال کی طاقت ہے
ذہن کی فطرت جیسا ہاتھی تھکا ہوا ہوا ہے اور دل بھی تھکا ہوا ہوا ہے۔ وہ تار جو کھینچنے کے لئے استعمال کررہی تھی وہ نیچے آچکی ہے

ਮਿਰਤਕਭਏਦਸੈਬੰਦਛੂਟੇਮਿਤ੍ਰਭਾਈਸਭਛੋਰੇ॥
mirtak bha-ay dasai bandchhootay mitar bhaa-ee sabhchhoray.
(as a result of meditation on Naam) all the ten sense organs have lost attachment of the body, thereby letting go desire, greed etc.
(ਹਰਿਸਿਮਰਨਦੀਬਰਕਤਨਾਲ) ਤੇਰੇਦਸੇਹੀਇੰਦ੍ਰੇਸਰੀਰਕਮੋਹਵਲੋਂਮਰਚੁਕੇਹਨ, ਸਰੀਰਕਮੋਹਵਲੋਂਅਜ਼ਾਦਹੋਗਏਹਨ, ਇਹਨਾਂਨੇਆਸਾਤ੍ਰਿਸ਼ਨਾਆਦਿਕਆਪਣੇਸਾਰੇਸੱਜਣ-ਮਿੱਤਰਭੀਛੱਡਦਿੱਤੇਹਨ।
مِرتکبھۓدسےَبنّدچھوُٹےمِت٘ربھائیِسبھچھورے॥
مرتک بھیئے ۔ موت ہوئی ۔ دسے بند۔ دس اعضے ۔ جیوت ۔ بندھن۔ زندگی کی غلامی ۔
)دسوں اعضائے جسمانی کی جسمانی محبت کتم ہو چکی ہے ۔ اور جسمانی محبت کی غلامی ختم ہو چکی ہے ۔ تمام دوست اور شریک حیات چھوڑ گئےہیں

ਕਹਤਕਬੀਰਾਜੋਹਰਿਧਿਆਵੈਜੀਵਤਬੰਧਨਤੋਰੇ॥੫॥੫॥੧੮॥
kahat kabeeraa jo har Dhi-aavai jeevat banDhan toray. ||5||5||18||
Kabeer says, one who contemplates on God, gets liberated from the bonds of false attachments.||5||5||18||
ਕਬੀਰਆਖਦਾਹੈ-ਜੋਜੋਭੀਮਨੁੱਖਪਰਮਾਤਮਾਨੂੰਸਿਮਰਦਾਹੈਉਹਜੀਊਂਦਾਹੀ (ਦੁਨੀਆਦੀਕਿਰਤ-ਕਾਰਕਰਦਾਹੋਇਆਹੀ, ਇਸਤਰ੍ਹਾਂ) ਸਰੀਰਕਮੋਹਦੇਬੰਧਨਤੋੜਲੈਂਦਾਹੈ॥੫॥੫॥੧੮॥
کہتکبیِراجوہرِدھِیاۄےَجیِۄتبنّدھنتورے॥੫॥੫॥੧੮॥
۔ کبیر صاحب جی کافر مان ہے ۔ کہ جو یاد خدا کو کرتا ہے ۔ دوران حیات و نجات وہ پاتا ہے

ਆਸਾਇਕਤੁਕੇ੪॥
aasaa iktukay 4.
Raag Aasaa, 4 Ik-Tukas:
آسااِکتُکے੪॥

ਸਰਪਨੀਤੇਊਪਰਿਨਹੀਬਲੀਆ॥
sarpanee tay oopar nahee balee-aa.
In this world, no one is more powerful than the Serpent Maya,
ਉਸ (ਮਾਇਆ) ਤੋਂਵਧੀਕਬਲਵਾਲਾ (ਜਗਤਵਿਚਹੋਰਕੋਈ) ਨਹੀਂਹੈ,
سرپنیِتےاوُپرِنہیِبلیِیا॥
سر پنی ۔ کبیر جی نے دنیاوی دولت کی سانپتنی سے تشبیح دی ہے ۔ اوپر زیادہ ۔ بلیا ۔ بلوانطاقتور۔
اس مائیا سے طاقتور کوئی نہین

ਜਿਨਿਬ੍ਰਹਮਾਬਿਸਨੁਮਹਾਦੇਉਛਲੀਆ॥੧॥
jin barahmaa bisan mahaaday-o chhalee-aa. ||1||
who has deceived even Brahma, Vishnu and Shiva. ||1||
ਜਿਸਮਾਇਆਨੇਬ੍ਰਹਮਾ, ਵਿਸ਼ਨੂੰਤੇਸ਼ਿਵ (ਵਰਗੇਵੱਡੇਦੇਵਤੇ) ਛਲਲਏਹਨ॥੧॥
جِنِب٘رہمابِسنُمہادیءُچھلیِیا॥੧॥
چھکلیا۔ دہوکا (1)
جس دنیاوی دولت نے برہما و شنو مہاویو کو بھی دہوکا دیا اور اپنے زیر کئے جو بھاری فرشتے کہلاتے تھے

ਮਾਰੁਮਾਰੁਸ੍ਰਪਨੀਨਿਰਮਲਜਲਿਪੈਠੀ॥
maar maar sarpanee nirmal jal paithee.
In a Holy Congregation, the powerful Maya becomes calm and Pure (worldly attachments lose their strength there).
ਪਰਇਹਬੜੇਜ਼ੋਰਾਂਵਿਚਆਈਮਾਇਆਸਤਸੰਗਵਿਚਸ਼ਾਂਤਹੋਜਾਂਦੀਹੈ, (ਭਾਵ, ਇਸਮਾਰੋ-ਮਾਰਕਰਨਵਾਲੀਮਾਇਆਦਾਪ੍ਰਭਾਵਸਤਸੰਗਵਿਚਅੱਪੜਿਆਂਠੰਡਾਪੈਜਾਂਦਾਹੈ),
مارُمارُس٘رپنیِنِرملجلِپیَٹھیِ॥
ایک مقدس جماعت میں ، طاقتور مایا پرسکون اور پاک ہو جاتی ہے

ਜਿਨਿਤ੍ਰਿਭਵਣੁਡਸੀਅਲੇਗੁਰਪ੍ਰਸਾਦਿਡੀਠੀ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
jin taribhavan dasee-alay gur parsaad deethee. ||1|| rahaa-o.
Maya becomes calm because by the Guru’s grace its reality gets exposed in the holy congregation. This is the maya which has bitten all the three worlds (installed worldly attachments in them).||1||Pause||
ਕਿਉਂਕਿਜਿਸਮਾਇਆਨੇਸਾਰੇਜਗਤਨੂੰ (ਮੋਹਦਾ) ਡੰਗਮਾਰਿਆਹੈ (ਸੰਗਤਿਵਿਚ) ਗੁਰੂਦੀਕਿਰਪਾਨਾਲ (ਉਸਦੀਅਸਲੀਅਤ) ਦਿੱਸਪੈਂਦੀਹੈ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
جِنِت٘رِبھۄنھُڈسیِئلےگُرپ٘رسادِڈیِٹھیِ॥੧॥رہاءُ॥
مگر یہ صحبت پاکدامنوں میں اس کےی طاقت کمزور ہو جاتی ہے ۔ جسنے تمام عالم کو اپنی گرفت میں لے رکھا ہے رحمت مرشد سے اس کی حقیقت واوقات کا پتہ چلتا ہے اور پہچان ہوتی ہے ۔ رہاو

ਸ੍ਰਪਨੀਸ੍ਰਪਨੀਕਿਆਕਹਹੁਭਾਈ॥
sarpanee sarpanee ki-aa kahhu bhaa-ee.
O’ Brother, there is no need to be afraid of this Maya!
ਸੋ, ਹੇਭਾਈ! ਇਸਮਾਇਆਤੋਂਇਤਨਾਡਰਨਦੀਲੋੜਨਹੀਂ।
س٘رپنیِس٘رپنیِکِیاکہءُبھائیِ॥
اےبھائیاس مایا سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے

ਜਿਨਿਸਾਚੁਪਛਾਨਿਆਤਿਨਿਸ੍ਰਪਨੀਖਾਈ॥੨॥
jin saach pachhaani-aa tin sarpanee khaa-ee. ||2||
One who realizes the eternal God, gets blessed with complete control over this snake-like Maya.||2||
ਜਿਸਨੇਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਪ੍ਰਭੂਨਾਲਜਾਣ-ਪਛਾਣਪਾਲਈਹੈ, ਉਸਨੇਇਸਮਾਇਆਨੂੰਆਪਣੇਵੱਸਵਿੱਚਕਰਲਿਆ॥੨॥
جِنِساچُپچھانِیاتِنِس٘رپنیِکھائیِ॥੨॥
وہ انسان جو ابدی خدا کو پہچانتا ہےاسے سانپ جیسی مایا پر مکمل کنٹرول حاصل ہوتا ہے

ਸ੍ਰਪਨੀਤੇਆਨਛੂਛਨਹੀਅਵਰਾ॥
sarpanee tay aan chhoochh nahee avraa.
With the exception of those who have realized the eternal God, no one else has escaped from the effect of Maya.
(ਪ੍ਰਭੂਨਾਲਜਾਣ-ਪਛਾਣਕਰਨਵਾਲਿਆਂਤੋਂਬਿਨਾ) ਹੋਰਕੋਈਜੀਵਇਸਸੱਪਣੀਦੇਅਸਰਤੋਂਬਚਿਆਹੋਇਆਨਹੀਂਹੈ।
س٘رپنیِتےآنچھوُچھنہیِاۄرا॥
ان لوگوں کو چھوڑ کر جو ابدی خدا کو سمجھ چکے ہیں ، کوئی دوسرا مایا کے اثر سے نہیں بچا ہے۔

ਸ੍ਰਪਨੀਜੀਤੀਕਹਾਕਰੈਜਮਰਾ॥੩॥
sarpanee jeetee kahaa karai jamraa. ||3||
When the serpent Maya is overcome, what harm can the demon of death (attachments) do?. ||3||
ਜਿਸਨੇ (ਗੁਰੂਦੀਕਿਰਪਾਨਾਲ) ਇਸਸੱਪਣੀਮਾਇਆਨੂੰਜਿੱਤਲਿਆਹੈ, ਜਮਵਿਚਾਰਾਭੀਉਸਦਾਕੁਝਵਿਗਾੜਨਹੀਂਸਕਦਾ॥੩॥
س٘رپنیِجیِتیِکہاکرےَجمرا॥੩॥
جب سانپ مایا پر قابو پا لیا جاتا ہے تو ، موت کا فرشتہ کیا نقصان پہنچا سکتا ہے؟