Urdu-Raw-Page-450

ਜਨ ਨਾਨਕ ਕਉ ਹਰਿ ਬਖਸਿਆ ਹਰਿ ਭਗਤਿ ਭੰਡਾਰਾ ॥੨॥
jan naanak ka-o har bakhsi-aa har bhagatbhandaaraa. ||2||
O’ God, You have blessed Your servant Nanak also with the treasure of Your devotional worship.
ਹੇ ਹਰੀ! ਆਪਣੇ ਦਾਸ ਨਾਨਕ ਨੂੰ ਭੀ ਤੂੰ ਹੀ (ਮੇਹਰ ਕਰ ਕੇ) ਆਪਣੀ ਭਗਤੀ ਦਾ ਖ਼ਜ਼ਾਨਾ ਬਖ਼ਸ਼ਿਆ ਹੈ
جننانککءُہرِبکھسِیاہرِبھگتِبھنّڈارا॥੨॥
بکھیسیا۔ عنایت فرمائی۔ ہر بھگت ۔ الہٰی عبادت و خدمت
خداوند نے اپنی عقیدت مند عبادت کا خزانہ نانک کو عطا کیا ہے۔

ਹਮ ਕਿਆ ਗੁਣ ਤੇਰੇ ਵਿਥਰਹ ਸੁਆਮੀ ਤੂੰ ਅਪਰ ਅਪਾਰੋ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
ham ki-aa guntayray vithreh su-aamee tooN apar apaaro raam raajay.
O’ God, what virtues of Yours can we describe? You are beyond any limit.
ਹੇ ਮੇਰੇ ਮਾਲਕ! ਅਸੀਂ ਤੇਰੇ ਕੇਹੜੇ ਕੇਹੜੇ ਗੁਣ ਗਿਣ ਕੇ ਦੱਸ ਸਕਦੇ ਹਾਂ? ਤੂੰ ਬੇਅੰਤ ਹੈਂ।
ہمکِیاگُنھتیرےۄِتھرہسُیامیِتوُنّاپراپارورامراجے॥
دتھر یہہ۔ تشریح کریں۔ سوآمی ۔ آقا۔ اپراپادو۔ لا محدود۔
اے رب ،اے مالک ، میں آپ کی کون کون سی خوبیاں بیان کرسکتا ہوں؟ اےبادشاہ ، آپ لامحدودوںمیں سے بھی لامحدود ہیں۔

ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਸਾਲਾਹਹ ਦਿਨੁ ਰਾਤਿ ਏਹਾ ਆਸ ਆਧਾਰੋ ॥
har naam saalaahah din raat ayhaa aas aaDhaaro.
We sing Your praises day and night, this alone is our hope and support.
ਹੇ ਸੁਆਮੀ! ਅਸੀਂ ਤਾਂ ਦਿਨੇ ਰਾਤ ਤੇਰੇ ਨਾਮ ਦੀ ਹੀ ਵਡਿਆਈ ਕਰਦੇ ਹਾਂ, ਸਾਡੇ ਜੀਵਨ ਦਾ ਇਹੀ ਸਹਾਰਾ ਹੈ ਇਹੀ।
ہرِنامُسالاہہدِنُراتِایہاآسآدھارو॥
صلاحو ۔ حمدوثناہ صفت صلاح۔ آدھارو۔ آسرا ۔
میں دن رات خداوندپاک کے نام کی تعریف کرتا ہوں۔ یہ ہی میری واحد امید اور سہارا ہے

ਹਮ ਮੂਰਖ ਕਿਛੂਅ ਨ ਜਾਣਹਾ ਕਿਵ ਪਾਵਹ ਪਾਰੋ ॥
ham moorakh kichhoo-a na jaanhaa kiv paavah paaro.
We are ignorant with no spiritual knowledge; how can we find Your limits?
ਹੇ ਪ੍ਰਭੂ! ਅਸੀਂ ਮੂਰਖ ਹਾਂ, ਸਾਨੂੰ ਕੋਈ ਸਮਝ ਨਹੀਂ ਹੈ, ਅਸੀਂ ਤੇਰਾ ਅੰਤ ਕਿਵੇਂ ਪਾ ਸਕਦੇ ਹਾਂ?
ہمموُرکھکِچھوُءنجانھہاکِۄپاۄہپارو॥
جانہا۔ سمجھتے ۔ کہ پاویہہ پار و۔ کیسے کامیابی حاصل ہو ۔
میں تو احمق ہوں ، اور مجھے کچھ بھی معلوم نہیں ۔ میں آپ کی حدود کو کیسے تلاش کرسکتا ہوں؟

ਜਨੁ ਨਾਨਕੁ ਹਰਿ ਕਾ ਦਾਸੁ ਹੈ ਹਰਿ ਦਾਸ ਪਨਿਹਾਰੋ ॥੩॥
jan naanak har kaa daas hai har daas panihaaro. ||3||
Nanak is only a servant of God and also the servant of His devotees.
ਦਾਸ ਨਾਨਕ ਤਾਂ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਦਾਸ ਹੈ, ਪਰਮਾਤਮਾ ਦੇ ਦਾਸਾਂ ਦਾ ਦਾਸ ਹੈ l
جنُنانکُہرِکاداسُہےَہرِداسپنِہارو॥੩॥
جن نانک ۔ خادم نانک ۔ہر کا داس۔ خادم خدا۔ پنہارو۔ پانی ڈھونے والا (3)
خدمتگار نانک رب کا غلام ہے (بلکہ)خداوند کے بندوں کا(ماشکی) پانی بردار ہے۔

ਜਿਉ ਭਾਵੈ ਤਿਉ ਰਾਖਿ ਲੈ ਹਮ ਸਰਣਿ ਪ੍ਰਭ ਆਏ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
ji-obhaavai ti-o raakh lai ham saran parabh aa-ay raam raajay.
O’ God, we have come to Your sanctuary, save us from vices as it pleases You.
ਹੇ ਪ੍ਰਭੂ! ਅਸੀਂ ਤੇਰੀ ਸਰਨ ਆਏ ਹਾਂ, ਹੁਣ ਜਿਵੇਂ ਤੇਰੀ ਮਰਜ਼ੀ ਹੋਵੇ ਤਿਵੇਂ ਸਾਨੂੰ (ਮੰਦੇ ਕੰਮਾਂ ਤੋਂ) ਬਚਾ ਲੈ।
جِءُبھاۄےَتِءُراکھِلےَہمسرنھِپ٘ربھآۓرامراجے॥
بھاوے ۔ رضا۔ مرضی ۔ جیسے چاہتا ہے ۔ سرن ۔ پناہ۔
اے مالک جیسے تجھے پسند ہوتا ہے (جب تو چاہتا ہے)تو مجھے بچا لیتا ہے۔اے مالک اے بادشاہ میں تیری پناہ چاہتا ہوں

ਹਮ ਭੂਲਿ ਵਿਗਾੜਹ ਦਿਨਸੁ ਰਾਤਿ ਹਰਿ ਲਾਜ ਰਖਾਏ ॥
hambhool vigaarhah dinas raat har laaj rakhaa-ay.
day and night we are making mistakes and ruining ourselves spiritually; O’ God,save our honor (bless us that we are accepted by You).
ਅਸੀਂ ਦਿਨ ਰਾਤ ਜੀਵਨ-ਰਾਹ ਤੋਂ ਖੁੰਝ ਕੇ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਨੂੰ ਖ਼ਰਾਬ ਕਰਦੇ ਰਹਿੰਦੇ ਹਾਂ। ਹੇ ਹਰੀ! ਸਾਡੀ ਇੱਜ਼ਤ ਰੱਖ।
ہمبھوُلِۄِگاڑہدِنسُراتِہرِلاجرکھاۓ॥
بھول۔ گمراہ ۔ وگاڑیہہ ۔ خراب۔ لاج ۔ عزت۔
اے میرے رب میں اپنے آپ کو دن رات برباد کر رہا ہوں۔ اے رب تو میری عزت کی حفاظت فرما

ਹਮ ਬਾਰਿਕ ਤੂੰ ਗੁਰੁ ਪਿਤਾ ਹੈ ਦੇ ਮਤਿ ਸਮਝਾਏ ॥
ham baarik tooN gur pitaa hai day mat samjhaa-ay.
O’ God, we are Your children; You are our Guru and father; give us Your Divine intellect and understanding (to avoid making the same mistakes).
ਹੇ ਪ੍ਰਭੂ! ਅਸੀਂ ਤੇਰੇ ਬੱਚੇ ਹਾਂ, ਤੂੰ ਸਾਡਾ ਗੁਰੂ ਹੈਂ ਤੂੰ ਸਾਡਾ ਪਿਤਾ ਹੈਂ, ਸਾਨੂੰ ਮਤਿ ਦੇ ਕੇ ਚੰਗੀ ਸਮਝ ਬਖ਼ਸ਼।
ہمبارِکتوُنّگُرُپِتاہےَدےمتِسمجھاۓ॥
بارک ۔ بچے ۔ تو گرد پتا ۔ مرشد اور باپہے ۔
میں تو صرف ایک بچہ ہوں؛ اے گرو ، آپ میرے والد ہو۔ براہ کرم مجھے سمجھ اور ہدایت عطا کر۔

ਜਨੁ ਨਾਨਕੁ ਦਾਸੁ ਹਰਿ ਕਾਂਢਿਆ ਹਰਿ ਪੈਜ ਰਖਾਏ ॥੪॥੧੦॥੧੭॥
jan naanak daas har kaaNdhi-aa har paij rakhaa-ay. ||4||10||17||
O’ God, Nanak is known as Your servant (devotee), please preserve the honor of Your devotee.
جنُنانکُداسُہرِکاںڈھِیاہرِپیَجرکھاۓ
کانڈھیا ۔ کہا جاتاہے کہلاتا ہے ۔ پیج ۔ عزت۔
خادم نانک رب کے غلام کے طور پر پہچانا جاتا ہے۔ اے رب اس کی عزت کی حفاظت فرما۔

ਆਸਾ ਮਹਲਾ ੪ ॥
aasaa mehlaa 4.
Raag Aasa, Fourth Guru:
آسامہلا੪॥

ਜਿਨ ਮਸਤਕਿ ਧੁਰਿ ਹਰਿ ਲਿਖਿਆ ਤਿਨਾ ਸਤਿਗੁਰੁ ਮਿਲਿਆ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
jin mastak Dhur har likhi-aa tinaa satgur mili-aa raam raajay.
Those who have the pre-ordained destiny, meet the True Guru.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਦੇਮੱਥੇਉਤੇਧੁਰਦਰਗਾਹਤੋਂਪਰਮਾਤਮਾਲਿਖਦੇਂਦਾਹੈਉਹਨਾਂਨੂੰਗੁਰੂਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈ,
جِنمستکِدھُرِہرِلِکھِیاتِناستِگُرُمِلِیارامراجے॥
مستک۔ پیشانی ۔ دھرہر ۔ الہٰی درگاہ سے ۔لکھیا ۔ تحریر ۔
سچے گرو خداوند بادشاہ سےصرفوہی ملاقات کا شرف حاصل کرسکتا ہے جن کی تقدیر میں پہلے سے ہی یہ لکھ دیا جاتا ہے

ਅਗਿਆਨੁ ਅੰਧੇਰਾ ਕਟਿਆ ਗੁਰ ਗਿਆਨੁ ਘਟਿ ਬਲਿਆ ॥
agi-aan anDhayraa kati-aa gur gi-aan ghat bali-aa.
is dispelled and their minds are illuminated with the divine wisdom blessed by the Guru.
(ਉਹਨਾਂ ਦੇ ਮਨ ਵਿਚੋਂ, ਗੁਰੂ ਦੀ ਮੇਹਰ ਨਾਲ) ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਵਲੋਂ ਬੇ-ਸਮਝੀ ਦਾ ਹਨੇਰਾ ਦੂਰ ਹੋ ਜਾਂਦਾ ਹੈ, ਤੇ, ਉਹਨਾਂ ਦੇ ਹਿਰਦੇ ਵਿਚ ਗੁਰੂ ਦੀ ਬਖ਼ਸ਼ੀ ਹੋਈ ਆਤਮਕ ਜੀਵਨ ਦੀ ਸੂਝ ਚਮਕ ਪੈਂਦੀ ਹੈ।
اگِیانُانّدھیراکٹِیاگُرگِیانُگھٹِبلِیا॥
اگیان اندھیر۔ لا علمی اور جہالت کی نا سمجھی ۔ گر گیان ۔ علم مرشد سے ۔ گھت بلیا۔ دل منور ہوا۔
گرو جہالت کے اندھیروں کو دور کرتا ہے ، اور روحانی دانشمندی ان کے دلوں کو منور کرتی ہے۔

ਹਰਿ ਲਧਾ ਰਤਨੁ ਪਦਾਰਥੋ ਫਿਰਿ ਬਹੁੜਿ ਨ ਚਲਿਆ ॥
har laDhaa ratan padaaratho fir bahurh na chali-aa.
They find the jewel-like precious God’s Name, which they never lose again
ਉਹਨਾਂ ਨੂੰ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਕੀਮਤੀ ਰਤਨ ਲੱਭ ਪੈਂਦਾ ਹੈ ਜੇਹੜਾ ਮੁੜ (ਉਹਨਾਂ ਪਾਸੋਂ ਕਦੇ) ਗੁਆਚਦਾ ਨਹੀਂ।
ہرِلدھارتنُپدارتھوپھِرِبہُڑِنچلِیا॥
ہر لدھا رتن پدارتھ ۔ خدا جو ایک قیمتی نعمت ہے ۔ بہور۔ دوبار ۔
جب انہیں خداوند کے زیور کی دولت حاصل ہوجاتی ہے توپھر وہ مزید کی تلاش میںبھٹکتے نہیں ہیں۔

ਜਨ ਨਾਨਕ ਨਾਮੁ ਆਰਾਧਿਆ ਆਰਾਧਿ ਹਰਿ ਮਿਲਿਆ ॥੧॥
jan naanak naam aaraaDhi-aa aaraaDh har mili-aa. ||1||
O’ Nanak, those who meditate on God’s Name with loving devotion, they merge with Him through this meditation.
ਹੇ ਦਾਸ ਨਾਨਕ! ਗੁਰੂ ਦੀ ਸਰਨ ਪੈ ਕੇ ਜੇਹੜੇ ਮਨੁੱਖ ਪਰਮਾਤਮਾ ਦਾ ਨਾਮ ਸਿਮਰਦੇ ਹਨ, ਨਾਮ ਸਿਮਰ ਕੇ ਉਹ ਪਰਮਾਤਮਾ ਵਿਚ ਹੀ ਲੀਨ ਹੋ ਜਾਂਦੇ ਹਨ ॥੧॥
ਰੀ! ਦਾਸ ਨਾਨਕ ਤੇਰਾ ਦਾਸ ਅਖਵਾਂਦਾ ਹੈ, (ਮੇਹਰ ਕਰ, ਆਪਣੇ ਦਾਸ ਦੀ) ਇੱਜ਼ਤ ਰੱਖ ॥
جننانکنامُآرادھِیاآرادھِہرِمِلِیا॥੧॥
نام ارادھیا ۔ نامیعنی سچ ا ور حقیقت کی ریاض کی (1
اے نانکجو لوگ محبت کے ساتھ(ذکر الہی) خدا کے نام پر مراقبہ کرتے ہیں وہ اسی مراقبہ کے ذریعہ اس کے ساتھ گھل مل جاتے ہیں۔

ਜਿਨੀ ਐਸਾ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਨ ਚੇਤਿਓ ਸੇ ਕਾਹੇ ਜਗਿ ਆਏ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
jinee aisaa har naam na chayti-o say kaahay jag aa-ay raam raajay.
Those who have not lovingly meditated on God’s Name, why did they even come into the world?
ਅਜੇਹਾਕੀਮਤੀਨਾਮਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਨੇਨਹੀਂਸਿਮਰਿਆ, ਉਹਜਗਤਵਿਚਕਾਹਦੇਲਈਜੰਮੇ?
جِنیِایَساہرِنامُنچیتِئوسےکاہےجگِآۓرامراجے॥
چیتہو۔ یاد کیا ۔ کاہے ۔ کیوں ۔ جگ آئیا۔ عالم میں پیدا ہوا۔
جن لوگوں نے اپنے ہوش میں خداوند کے نامکا مراقبہ نہیں کیا ہے – وہ خدایا بادشاہ ، کیوں انہوں نے دنیا میں آنے کی زحمت گوئی کی؟

ਇਹੁ ਮਾਣਸ ਜਨਮੁ ਦੁਲੰਭੁ ਹੈ ਨਾਮ ਬਿਨਾ ਬਿਰਥਾ ਸਭੁ ਜਾਏ ॥
ih maanas janam dulambh hai naam binaa birthaa sabh jaa-ay.
This human life is very difficult to obtain, without Naam, it all goes to waste.
ਇਹਮਨੁੱਖਾਜਨਮਬੜੀਮੁਸ਼ਕਲਨਾਲਮਿਲਦਾਹੈ, ਸਿਮਰਨਤੋਂਬਿਨਾਸਾਰੇਦਾਸਾਰਾਵਿਅਰਥਚਲਾਜਾਂਦਾਹੈ।
اِہُمانھسجنمُدُلنّبھُہےَنامبِنابِرتھاسبھُجاۓ॥
مانس ۔ انسانی جنم زندگی ۔ دلنبھ ۔ نایاب ۔ برتھا ۔ بیکار۔ بیفائدہ ۔
اس انسانی اوتار کو پانا بہت مشکل ہے اور ذکر الہی(نام) کے بغیر یہ سب بے سود اور بیکار ہے

ਹੁਣਿ ਵਤੈ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਨ ਬੀਜਿਓ ਅਗੈ ਭੁਖਾ ਕਿਆ ਖਾਏ ॥
hun vatai har naam na beeji-o agai bhukhaa ki-aa khaa-ay.
One who does not plant the seed of God’s Name at the right opportunity (this human life), then how will he satisfy the spiritually hungry soul in the world hereafter?
ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਾਜਨਮਵਿਚਢੁਕਵੇਂਸਮੇ (ਆਪਣੇਹਿਰਦੇਦੀਖੇਤੀਵਿਚ) ਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਨਹੀਂਬੀਜਦਾ, ਉਹਆਤਮਕਜੀਵਨਆਤਮ-ਜੀਵਨਦੀਭੁਖਕਿਵੇਂਮੇਟੇਗਾ?
ہُنھِۄتےَہرِنامُنبیِجِئواگےَبھُکھاکِیاکھاۓ॥
ہن وے ۔ جائز صبح وقت پر ۔ ہر نام ۔ الہٰی نام ۔ سچ اور حقیقت ۔ پیجو ۔ نالوئی مراد دل میں نہ بسائیااسے عمل میں نہ لائیا ۔ اگے بھکھا کیا کھائے ۔ مراد بوقت یوم حساب اعمالات۔ اسکا کیا حشر ہوگا ۔
اب اگرانانتہائی خوش قسمت موسم میں (سازگار حالات میں بھی)، وہ خداوند کے نام کا بیج نہیں بوتا۔ تودنیا میں بھوکا روح کیا کھائے گا؟

ਮਨਮੁਖਾ ਨੋ ਫਿਰਿ ਜਨਮੁ ਹੈ ਨਾਨਕ ਹਰਿ ਭਾਏ ॥੨॥
manmukhaa no fir janam hai naanak har bhaa-ay. ||2||
O’ Nanak, the self-willed persons are born again and again, such is God’s Will.
ਹੇਨਾਨਕ! ਆਪਣੇਮਨਦੇਪਿੱਛੇਤੁਰਨਵਾਲਿਆਂਨੂੰਮੁੜਮੁੜਜਨਮਾਂਦਾਚੱਕਰਮਿਲਦਾਹੈ (ਉਹਨਾਂਵਾਸਤੇ), ਪਰਮਾਤਮਾਨੂੰਇਹੀਚੰਗਾਲੱਗਦਾਹੈ
منمُکھانوپھِرِجنمُہےَنانکہرِبھاۓ॥੨॥
منلھا ۔ خودی پسند۔ مرید من ۔ پھر جنم ۔ تناسخ ۔ ہر بھائے ۔ الہٰی رضا و پسند (2)
نفسانی خواہشات رکھنے والے بار بار پیدا ہوتے ہیں۔اے نانک ،یہ رب کی مرضی ہے

ਤੂੰ ਹਰਿ ਤੇਰਾ ਸਭੁ ਕੋ ਸਭਿ ਤੁਧੁ ਉਪਾਏ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
tooN har tayraa sabh ko sabhtuDh upaa-ay raam raajay.
O’ God, You are the Master of all, all belong to You, all beings are created by You. ਹੇਹਰੀ! ਤੂੰਸਭਜੀਵਾਂਦਾਮਾਲਕਹੈਂ, ਹਰੇਕਜੀਵਤੇਰਾਹੈ, ਸਾਰੇਜੀਵਤੂੰਹੀਪੈਦਾਕੀਤੇਹੋਏਹਨ।
توُنّہرِتیراسبھُکوسبھِتُدھُاُپاۓرامراجے॥
سب کو ۔ سارے ۔ تدھاپائے ۔ تیرے پیدا کئے ہوئے ہیں۔
اے خداوند تو سب کا ہے ، اوریہ سب تیرے ہی(بندے) ہیں۔ اے رببادشاہ تو نے(ہی) سب کچھ پیدا کیاہے۔

ਕਿਛੁ ਹਾਥਿ ਕਿਸੈ ਦੈ ਕਿਛੁ ਨਾਹੀ ਸਭਿ ਚਲਹਿ ਚਲਾਏ ॥
kichh haath kisai dai kichh naahee sabh chaleh chalaa-ay.
Nothing is in anyone’s hands; they live their lives in whatever way You make them to live.
ਕਿਸੇਜੀਵਦੇਆਪਣੇਵੱਸਵਿਚਕੁਝਨਹੀਂ, ਜਿਵੇਂਤੂੰਤੋਰਦਾਹੈਂਤਿਵੇਂਸਾਰੇਜੀਵਤੁਰਦੇਹਨ।
کِچھُہاتھِکِسےَدےَکِچھُناہیِسبھِچلہِچلاۓ॥
ہاتھ ۔ اختیار ۔ سب چلے چلائے ۔ سب زیر فرامین الہٰی کار کرتے ہیں۔
کسی کے ہاتھ میں کچھ نہیں ہے سب تیری مرضی کے مطابق ہی چلتے ہیں

ਜਿਨ੍ਹ੍ਹ ਤੂੰ ਮੇਲਹਿ ਪਿਆਰੇ ਸੇ ਤੁਧੁ ਮਿਲਹਿ ਜੋ ਹਰਿ ਮਨਿ ਭਾਏ ॥
jinHtooN mayleh pi-aaray say tuDh mileh jo har man bhaa-ay.
O’ Beloved God, You unite only those with You who are pleasing to You.ਹੇਪਿਆਰੇ! ਜਿਨ੍ਹਾਂਜੀਵਾਂਨੂੰਤੂੰਆਪਣੇਨਾਲਮਿਲਾਂਦਾਹੈਂ, ਜੇਹੜੇਤੈਨੂੰਚੰਗੇਲੱਗਦੇਉਹਤੇਰੇਚਰਨਾਂਵਿਚਜੁੜੇਰਹਿੰਦੇਹਨ।
جِن٘ہ٘ہتوُنّمیلہِپِیارےسےتُدھُمِلہِجوہرِمنِبھاۓ॥
ہر من بھائے ۔ الہٰی رضا سے ۔
اے محبوب ، جس کے ذریعہ تم اتنے متحد ہوجاتے ہو ، وہ صرف تمہارے ساتھ متحد ہیں۔ وہ تنہا تیرے دماغ کو راضی کر رہے ہیں۔

ਜਨ ਨਾਨਕ ਸਤਿਗੁਰੁ ਭੇਟਿਆ ਹਰਿ ਨਾਮਿ ਤਰਾਏ ॥੩॥
jan naanak satgur bhayti-aa har naam taraa-ay. ||3||
O’ Nanak, those who meet the true Guru and follow his teachings, the Guru helps them cross over the worldly ocean of vices through meditation on God’s Name.
ਹੇਨਾਨਕ! ਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਨੂੰਗੁਰੂਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈ, ਗੁਰੂਉਹਨਾਂਨੂੰਹਰੀਦੇਨਾਮਵਿਚਜੋੜਕੇ (ਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰਤੋਂ) ਪਾਰਲੰਘਾਲੈਂਦਾਹੈ
جننانکستِگُرُبھیٹِیاہرِنامِتراۓ॥੩॥
بھیٹیا۔ ملاپ کیا (3)
خادم نانک کیسچے گرو سے ملاقات ہوئی ہے ، اور وہ رب کے(پاک کلام) نام کے ذریعے اس کو عبورکر گیا ہے۔

ਕੋਈ ਗਾਵੈ ਰਾਗੀ ਨਾਦੀ ਬੇਦੀ ਬਹੁ ਭਾਤਿ ਕਰਿ ਨਹੀ ਹਰਿ ਹਰਿ ਭੀਜੈ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
ko-ee gaavai raagee naadee baydee baho bhaat kar nahee har har bheejai raam raajay.
Some sing His praises by musical Ragas, some by blowing horn, some by reading religious scriptures and some in many other ways, but God is not pleased by any of these.
ਕੋਈਮਨੁੱਖਰਾਗਗਾਕੇ, ਕੋਈਸੰਖਆਦਿਕਸਾਜਵਜਾਕੇ, ਕੋਈਧਰਮਪੁਸਤਕਾਂਪੜ੍ਹਕੇਕਈਤਰੀਕਿਆਂਨਾਲਪਰਮਾਤਮਾਦੇਗੁਣਗਾਂਦਾਹੈਪਰਪਰਮਾਤਮਾਇਸਤਰ੍ਹਾਂਪ੍ਰਸੰਨਨਹੀਂਹੁੰਦਾ।
کوئیِگاۄےَراگیِنادیِبیدیِبہُبھاتِکرِنہیِہرِہرِبھیِجےَرامراجے॥
کوئی گاوےراگی نادی ویدی ۔ کوئی بحر کی مطابق کوئی آواز کی مطابق کوئی مذہبی کتابوں کی مطابق۔ بھانت۔ قسم۔ طریقوں سے ۔ نہیں ہر ہر بھیجے۔ الہٰی خوشنودی حاصل نہیں ہو سکتی ۔
کچھ لوگ موسیقانہ راگ اور ناد کے ذریعے ،کچھ ویدوں اور بہت سے دوسرےطریقوں سے بھگوان کے گیت گاتے ہیں، لیکن خداوند حار حار ان سب چیزوں سے راضی نہیں ہوتا۔
ਜਿਨਾ ਅੰਤਰਿ ਕਪਟੁ ਵਿਕਾਰੁ ਹੈ ਤਿਨਾ ਰੋਇ ਕਿਆ ਕੀਜੈ ॥
jinaa antar kapat vikaar hai tinaa ro-ay ki-aa keejai.
Those whose hearts are filled with fraud and vices – what good their outward crying can do?
ਜਿਨ੍ਹਾਂਦੇਅੰਦਰਫ਼ਰੇਬਅਤੇਪਾਪਹੈ, ਉਹਨਾਂਦਾਵਿਰਲਾਪਕਰਨਾਕੀਅਰਥਹੈ?
جِناانّترِکپٹُۄِکارُہےَتِناروءِکِیاکیِجےَ॥
گپٹ ۔ دہوکا بازی۔ دکار۔ برائیاں۔ روئے ۔ آہ واری ۔
جن لوگوں کے اندر(دل ودماغ، من)ہی دھوکہ دہی اور بدعنوانی سے بھرےپڑے ہیں – ان کے چیخ و پکار(عبادت) کرنے سے ان کو کیا نفع حاصل ہو سکتا ہے؟

ਹਰਿ ਕਰਤਾ ਸਭੁ ਕਿਛੁ ਜਾਣਦਾ ਸਿਰਿ ਰੋਗ ਹਥੁ ਦੀਜੈ ॥
har kartaa sabh kichh jaandaa sir rog hath deejai.
God, the Creator, knows everything even if they try to hide their sins and vices which is like trying to hide a disease by covering the head by hand.
ਅੰਦਰਲੇਰੋਗਾਂਨੂੰ ( ਵਿਕਾਰਾਂਨੂੰ ) ਬੇਸ਼ੱਕਲੁਕਾਣਦਾਜਤਨਕੀਤਾਜਾਏ, ਕਰਤਾਰਹਰੇਕਗੱਲਜਾਣਦਾਹੈ
ہرِکرتاسبھُکِچھُجانھداسِرِروگہتھُدیِجےَ॥
ہر کرتا ۔ کارساز خدا۔ کرتار۔ سر روگ ۔ ہتھ ویجے ۔ خواہ برائیوں پر کتنا پردہ پائیں۔
اگرچہ وہ اپنے گناہوں اور بیماریوں(بد اعمالیوں) کی وجوہات کو چھپانے کی کوشش کرتے ہیں تاہم خداوند ان کے بارے سب کچھ جانتا ہے

ਜਿਨਾ ਨਾਨਕ ਗੁਰਮੁਖਿ ਹਿਰਦਾ ਸੁਧੁ ਹੈ ਹਰਿ ਭਗਤਿ ਹਰਿ ਲੀਜੈ ॥੪॥੧੧॥੧੮॥
jinaa naanak gurmukh hirdaa suDh hai har bhagat har leejai. ||4||11||18||
O’ Nanak, only those Guru’s followers whose hearts are pure (free from sins and vices), realize God through devotional worship.
ਹੇਨਾਨਕ! ਗੁਰੂਦੀਸਰਨਪੈਕੇਜਿਨ੍ਹਾਂਦਾਹਿਰਦਾਪਵਿਤ੍ਰਹੋਜਾਂਦਾਹੈ, ਉਹੀਪਰਮਾਤਮਾਦੀਭਗਤੀਕਰਦੇਹਨl
جِنانانکگُرمُکھِہِرداسُدھُہےَہرِبھگتِہرِلیِجےَ
ہر دا سدھ ہے ۔ جسکا قلب۔ ذہن۔ دل پاک ۔
اے نانک جن گورمکھوں کے دل پاک اور صاف ہیں وہ کامل یکسوئی والی عبادت کے ذریعے مالک حار حار کو پا لیتے ہیں

ਆਸਾ ਮਹਲਾ ੪ ॥
aasaa mehlaa 4.
Raag Aasaa, Fourth Guru:
آسامہلا੪॥

ਜਿਨ ਅੰਤਰਿ ਹਰਿ ਹਰਿ ਪ੍ਰੀਤਿ ਹੈ ਤੇ ਜਨ ਸੁਘੜ ਸਿਆਣੇ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
jin antar har har pareet hai tay jan sugharh si-aanay raam raajay.
Those in whose heart is enshrined the love for God, are the most wise people.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਬੰਦਿਆਂਦੇਹਿਰਦੇਵਿਚਪਰਮਾਤਮਾਦਾਪਿਆਰਮੌਜੂਦਹੈ (ਪਰਮਾਤਮਾਦੀਆਂਨਜ਼ਰਾਂਵਿਚ) ਉਹਬੰਦੇਸੁਚੱਜੇਹਨਸਿਆਣੇਹਨ।
جِنانّترِہرِہرِپ٘ریِتِہےَتےجنسُگھڑسِیانھےرامراجے॥
انتر ۔ دل میں۔ پریت ۔ پیار۔ سگھڑ۔ با شعور۔ سیانے ۔ دانشمند
جن لوگوں کے دل خداوند حار حار کی محبت سے بھرے ہیں ، اے رب بادشاہ وہ لوگ سب سے زیادہ دانا اور انتہائی( چالاک) ہوشیار لوگ ہیں۔

ਜੇ ਬਾਹਰਹੁ ਭੁਲਿ ਚੁਕਿ ਬੋਲਦੇ ਭੀ ਖਰੇ ਹਰਿ ਭਾਣੇ ॥
jay baahrahu bhul chuk bolday bhee kharay har bhaanay.
Even if by mistake they happen to utter some inappropriate words, they still remain very dear to God.
ਜੇਉਹਕਦੇਉਕਾਈਖਾਕੇਗ਼ਲਤੀਨਾਲਬਾਹਰਲੋਕਾਂਵਿਚ (ਉਕਾਈਵਾਲੇਬੋਲ) ਬੋਲਬੈਠਦੇਹਨਤਾਂਭੀਪਰਮਾਤਮਾਨੂੰਉਹਚੰਗੇਪਿਆਰੇਲੱਗਦੇਹਨ।
جےباہرہُبھُلِچُکِبولدےبھیِکھرےہرِبھانھے॥
۔ باہر ہو بھول چک ۔ گمراہیمیں بھی ۔ تب بھی ۔ گھرے ۔ نہایت۔ہر بھانے ۔ خدا کے پیارے
یہاں تک کہ اگر وہ ظاہری طور پر(علامتی طور پر) غلط بیانی بھی کرتے ہیں تو بھی وہ خداوند کے منظور نظر ہوتے ہیں۔

ਹਰਿ ਸੰਤਾ ਨੋ ਹੋਰੁ ਥਾਉ ਨਾਹੀ ਹਰਿ ਮਾਣੁ ਨਿਮਾਣੇ ॥
har santaa no hor thaa-o naahee har maan nimaanay
God’s devotees have no other place for their support, they have this faith that God preserves the honor of the meek.
ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਸੰਤਾਂਨੂੰਪਰਮਾਤਮਾਤੋਂਬਿਨਾਹੋਰਕੋਈਆਸਰਾਨਹੀਂਹੁੰਦਾਉਹਜਾਣਦੇਹਨਕਿਪਰਮਾਤਮਾਹੀਨਿਮਾਣਿਆਂਦਾਮਾਣਹੈ।
ہرِسنّتانوہورُتھاءُناہیِہرِمانھُنِمانھے॥
۔ ہر ۔ ہرمان نمانے ۔ بے وقاروں کے لئے وقار۔
خداوند کے اولیا کا اور دوسرا کون سا مقام ہے۔ خداوند کریم تمام بے عزتوں کا اعزاز ہے

ਜਨ ਨਾਨਕ ਨਾਮੁ ਦੀਬਾਣੁ ਹੈ ਹਰਿ ਤਾਣੁ ਸਤਾਣੇ ॥੧॥
jan naanak naam deebaan hai har taan sataanay. ||1||
O’ Nanak, God’s Name is the support of the devotees; God is their strength.
ਹੇਨਾਨਕ! ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਸੇਵਕਾਂਵਾਸਤੇਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਹੀਸਹਾਰਾਹੈ, ਪਰਮਾਤਮਾਹੀਉਹਨਾਂਦਾਬਲਹੈl
جننانکنامُدیِبانھُہےَہرِتانھُستانھے॥੧॥
دیبان ۔ جائے فریاد۔ ستانے ۔ ناتوانوں ۔ عاجزوں لاچاروں محبوروں ۔ تان ۔ طاقت۔ قوت (1) سہارا ۔
نوکر نانک کے لئے نام ،ذکرالہی ایک شاہی عدالت ہے۔ خداوند کی قدرت ہی اس(نانک) کی واحد طاقت ہے

ਜਿਥੈ ਜਾਇ ਬਹੈ ਮੇਰਾ ਸਤਿਗੁਰੂ ਸੋ ਥਾਨੁ ਸੁਹਾਵਾ ਰਾਮ ਰਾਜੇ ॥
jithai jaa-ay bahai mayraa satguroo so thaan suhaavaa raam raajay.
The place where my true Guru goes and sits, that place becomes beautiful for his devotees.
ਜਿਸਥਾਂਤੇਪਿਆਰਾਗੁਰੂਜਾਬੈਠਦਾਹੈ (ਗੁਰ-ਸਿੱਖਾਂਵਾਸਤੇ) ਉਹਥਾਂਸੋਹਣਾਬਣਜਾਂਦਾਹੈ।
جِتھےَجاءِبہےَمیراستِگُروُسوتھانُسُہاۄارامراجے॥
اے خداوند ، میرا سچا رہنما (گرو)جہاں بھی جاتا ہے اور جہاں بھی بیٹھتا ہے وہ جگہ خوبصورت ہو جاتی ہے

ਗੁਰਸਿਖੀ ਸੋ ਥਾਨੁ ਭਾਲਿਆ ਲੈ ਧੂਰਿ ਮੁਖਿ ਲਾਵਾ ॥
gusikheeN so thaan bhaali-aa lai Dhoor mukh laavaa.
The Guru’s disciples seek out that place and it becomes so sacred to them, that they apply the dust from that place to their foreheads.
ਗੁਰਸਿੱਖਉਸਥਾਂਨੂੰਲੱਭਲੈਂਦੇਹਨ, ਤੇਉਸਦੀਧੂੜਲੈਕੇਆਪਣੇਮੱਥੇਉਤੇਲਾਲੈਂਦੇਹਨ।
گُرسِکھیِنسوتھانُبھالِیالےَدھوُرِمُکھِلاۄا॥
سوہنا ۔ خوبصورت ۔ اچھا۔ گر سکھیں۔ مرید ان مرشد ۔دھور ۔ دھول ۔ خاک
گرو کے سکھوں نے اس(مقدس ) جگہ کو تلاش کر لیا۔(وہ جگہ ان کے لئے اتنی مقدس ہے کہ) وہ وہاں کیدھول لے کر اپنے چہروں پرملتے ہیں۔

ਗੁਰਸਿਖਾ ਕੀ ਘਾਲ ਥਾਇ ਪਈ ਜਿਨ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਧਿਆਵਾ ॥
gursikhaa kee ghaal thaa-ay pa-ee jin har naam Dhi-aavaa.
The Guru’s disciples who meditate on God’s Name, their hard work is approved in His Court.
ਜੇਹੜੇਗੁਰਸਿੱਖਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਸਿਮਰਦੇਹਨਉਹਨਾਂਦੀ (ਗੁਰ-ਅਸਥਾਨਭਾਲਣਦੀ) ਮੇਹਨਤਪਰਮਾਤਮਾਦੇਦਰਤੇਕਬੂਲਹੋਜਾਂਦੀਹੈ।
گُرسِکھاکیِگھالتھاءِپئیِجِنہرِنامُدھِیاۄا॥
۔ گھال۔ محنت و مشقت۔ تھائے پٹی ۔ برآور ہوئی ۔ جن ہر نام دھیاوا۔ جنہوں نے الہٰی نام کی ریاض کی ۔ جن ۔ جس نے ۔
گرو کے سکھوں کے وہ کام جو خداوند کے نام پر مراقبہ کرتے ہیں خداکی عدالت میں ان کو قبول (منظور ) کر لیا جاتا ہے۔

ਜਿਨ੍ਹ੍ਹ ਨਾਨਕੁ ਸਤਿਗੁਰੁ ਪੂਜਿਆ ਤਿਨ ਹਰਿ ਪੂਜ ਕਰਾਵਾ ॥੨॥
jinH naanak satgur pooji-aa tin har pooj karaavaa. ||2||
O’ Nanak, they who worship the true Guru (respect him and follow his teachings with love and devotion), God makes them respected by others.
ਨਾਨਕ, ਜੇਹੜੇਮਨੁੱਖ (ਆਪਣੇਹਿਰਦੇਵਿਚ) ਗੁਰੂਦਾਆਦਰ-ਸਤਕਾਰਬਿਠਾਂਦੇਹਨ, ਪਰਮਾਤਮਾ (ਜਗਤਵਿਚਉਹਨਾਂਦਾ) ਆਦਰਕਰਾਂਦਾਹੈ
جِن٘ہ٘ہنانکُستِگُرُپوُجِیاتِنہرِپوُجکراۄا॥੨॥
ستگر ۔سچا مرشد۔ ہر پوج کر ا دا۔ انہیں خدا قابل پرستش بنادتا ہے (2 )
اے نانک جو لوگ سچے گرو کی پوجا کرتے ہیں ، خداوند کریم بدلے میں(ان کی پوجا کرواتا ہے) لوگوں کی نطر میں ان کو با عزت بنا دیتے ہیں