Urdu-Raw-Page-429

ਸਹਜੇਨਾਮੁਧਿਆਈਐਗਿਆਨੁਪਰਗਟੁਹੋਇ॥੧॥
sehjay naam Dhi-aa-ee-ai gi-aan pargat ho-ay. ||
Divine knowledge becomes manifest by intuitively meditating on Naam. ||1||
ਆਤਮਕਅਡੋਲਤਾਵਿਚਟਿਕਕੇਨਾਮਦਾਸਿਮਰਨਕਰਨਦੁਆਰਾ, ਅੰਦਰਆਤਮਕਜੀਵਨਦੀਸੂਝਉੱਘੜਪੈਂਦੀਹੈ॥੧॥
سہجےنامُدھِیائیِئےَگِیانُپرگٹُہوءِ॥੧॥
سجے ۔روحانی سکون میں۔ نام دھیایئے ۔ نام۔ یعنی سچ حقیقت میں دھیان دینے سے ۔ گیان پرگٹ ہوئے ۔ علم ظہور میں اتا ہے
جن کی بدولت روحانی سکون میں خدا کو یاد کیا جاسکتا ہے ۔ جس سے اخلاقی و روحانی زندگی گذارنے کے سلیقے و طریقے کا علم حاصل ہوتا ہے

ਏਮਨਮਤਜਾਣਹਿਹਰਿਦੂਰਿਹੈਸਦਾਵੇਖੁਹਦੂਰਿ॥
ay man mat jaaneh har door hai sadaa vaykh hadoor.
O’ my mind, do not think that GOd is far away; always behold Him close at hand.
ਹੇਮੇਰੇਮਨ! ਕਿਤੇਇਹਨਾਹਸਮਝਲਈਂਕਿਪਰਮਾਤਮਾ (ਤੈਥੋਂ) ਦੂਰਵੱਸਦਾਹੈ, ਉਸਨੂੰਸਦਾਆਪਣੇਅੰਗ-ਸੰਗਵੱਸਦਾਵੇਖ।
اےمنمتجانھہِہرِدوُرِہےَسداۄیکھُہدوُرِ॥
مت جانیہہ ۔ مت سمجھ۔ ہر دور ہے ۔ خدا دور ہے ۔ سدا دیکھ حدود۔ اسے ہمیشہ حاضر و ناظر سمجھ۔
اے دل یہ زندگی سمجھ کہ خدا دور ہے خدا تو ہمیشہ تیرے ساتھ ہے اسے اپنے ساتھ بستا ہے۔

ਸਦਸੁਣਦਾਸਦਵੇਖਦਾਸਬਦਿਰਹਿਆਭਰਪੂਰਿ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
sad sundaa sad vaykh-daa sabad rahi-aa bharpoor. ||1|| rahaa-o.
God is always listeningand always watching over us; He can be realized pervading everywhere through the Guru’s word. ||1||Pause||
ਉਹਸਦਾਸ਼ਭ-ਕੁਝਸੁਣਰਿਹਾਹੈਤੇਵੇਖਰਿਹਾਹੈ।ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਉਹਵਿਆਪਕਦਿੱਸਪਏਗਾ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
سدسُنھداسدۄیکھداسبدِرہِیابھرپوُرِ॥੧॥رہاءُ॥
سبد رہیابھر پور ۔ وہ کلام میں مکمل بستا ہے ۔
خدا ہمیشہ سنتا ہے اور ہمیشہ ہم پر نگاہ رکھتا ہے۔ وہ گرو کے لفظ کے ذریعہ ہر جگہ پھیلتا ہوا محسوس کیا جاسکتا ہے

ਗੁਰਮੁਖਿਆਪੁਪਛਾਣਿਆਤਿਨ੍ਹ੍ਹੀਇਕਮਨਿਧਿਆਇਆ॥
gurmukh aap pachhaani-aa tinHee ik man Dhi-aa-i-aa.
The Guru’s followers understand their own selves and they meditate on God with a focused mind.
ਗੁਰੂਦੇਸਨਮੁਖਰਹਿਣਵਾਲੇਆਪਣੇਆਪਨੂੰਸਮਝਦੇਹਨਤੇਸੁਰਤਜੋੜਕੇਉਹਸੁਆਮੀਦਾਸਿਮਰਨਕਰਦੇਹਨ।
گُرمُکھِآپُپچھانھِیاتِن٘ہ٘ہیِاِکمنِدھِیائِیا॥
مرید مرشد انسان اپنے اخلاقی و روحانی زندگی جو وہ گذاررہے ہوتے ہیں ان کی نیک و بد اوچ نیچ و گمراہی کو بھانپتے رہتے ہیں وہی واحد خدا میں دھیان لگاتے ہیں۔

ਸਦਾਰਵਹਿਪਿਰੁਆਪਣਾਸਚੈਨਾਮਿਸੁਖੁਪਾਇਆ॥੨॥
sadaa raveh pir aapnaa sachai naam sukh paa-i-aa. ||2||
They always enjoy the company of their Husband-God and attain celestial peace by attuning to the eternal God’s Name. ||2||
ਉਹਸਦਾਆਪਣੇਪ੍ਰਭੂ-ਪਤੀਦਾਮਿਲਾਪਮਾਣਦੇਹਨ, ਤੇਸਦਾ-ਥਿਰਪ੍ਰਭੂਨਾਮਵਿਚਜੁੜਕੇਆਤਮਕਆਨੰਦਹਾਸਲਕਰਦੇਹਨ॥੨॥
سدارۄہِپِرُآپنھاسچےَنامِسُکھُپائِیا॥੨॥
ہمیشہ الہٰی ملاپ میں رہتے ہیں اس سے اخلاقی و روحانی سکون پاتے ہیں۔

ਏਮਨਤੇਰਾਕੋਨਹੀਕਰਿਵੇਖੁਸਬਦਿਵੀਚਾਰੁ॥
ay man tayraa ko nahee kar vaykh sabad veechaar.
O’ my mind, by reflecting upon the Guru’s word, you can see that in reality no one except God is your true companion.
ਹੇਮਨ! ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਵਿਚਾਰਕਰਕੇਵੇਖਪ੍ਰਭੂਤੋਂਬਿਨਾਤੇਰਾਕੋਈਸੱਚਾਸਾਥੀਨਹੀਂਹੈ,
اےمنتیراکونہیِکرِۄیکھُسبدِۄیِچارُ॥
سبدویچار ۔ کلام سمجھ ۔
اے دل کلام کو سمجھ دیکھ لے کہ اس عالم میں تیرا کوئی ساتھی نہیں

ਹਰਿਸਰਣਾਈਭਜਿਪਉਪਾਇਹਿਮੋਖਦੁਆਰੁ॥੩॥
har sarnaa-ee bhaj pa-o paa-ihi mokhdu-aar. ||3||
Therefore, run to God‘s refuge and find freedom from the bonds of Maya. ||3||
ਦੌੜਕੇਪ੍ਰਭੂਦੀਸਰਨਆਪਉ, (ਇਸਤਰ੍ਹਾਂਮਾਇਆਦੇਮੋਹਦੇਬੰਧਨਾਂਤੋਂ) ਖ਼ਲਾਸੀਦਾਰਾਹਲੱਭਲਏਂਗਾ॥੩॥
ہرِسرنھائیِبھجِپءُپائِہِموکھدُیارُ॥੩॥
ہر سرنائی ۔ الہٰی پناہ۔ موکھ دوآر۔ مکتی یا نجات کا در(3)
اس لئے خدا کی پناہ میں آتا کہ ذہنی و مادیاتی غلامی سے نجات کا درپا سکے ۔

ਸਬਦਿਸੁਣੀਐਸਬਦਿਬੁਝੀਐਸਚਿਰਹੈਲਿਵਲਾਇ॥
sabad sunee-ai sabad bujhee-ai sach rahai liv laa-ay.
One who listens and understands the Guru’s word, he always remains attuned to the eternal God.
ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਗੁਰ-ਸ਼ਬਦਵਿਚਚਿੱਤਜੋੜਦਾਹੈਉਹਸਦਾ-ਥਿਰਹਰੀਵਿਚਸੁਰਤਿਜੋੜੀਰੱਖਦਾਹੈ;
سبدِسُنھیِئےَسبدِبُجھیِئےَسچِرہےَلِۄلاءِ॥
سوبھد۔ نیک شہرت۔ نام سچ اورحقیقت کی
اے دل کلام مرشد کے ذریعے الہٰی نام یعنی سچ اور حقیقت سنا جاسکتا ہے سمجھا جا سکتا ہے

ਸਬਦੇਹਉਮੈਮਾਰੀਐਸਚੈਮਹਲਿਸੁਖੁਪਾਇ॥੪॥
sabday ha-umai maaree-ai sachai mahal sukh paa-ay. ||4||
Through the Guru’s word, he eradicates his ego and enjoys the spiritual peace by realizing God in his heart. ||4||
ਸ਼ਬਦਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲਹੀ (ਅੰਦਰੋਂ) ਹਉਮੈਮੁਕਾਈਜਾਸਕਦੀਹੈਅਤੇਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਹਰੀਦੇਚਰਨਾਂਵਿਚਆਨੰਦਮਾਣਦਾਹੈ॥੪॥
سبدےہئُمےَماریِئےَسچےَمہلِسُکھُپاءِ॥੪॥
سوبھ۔ نیکی ۔
اور کلام کی برکت سے خودی مٹا کر اسے حقیقی زندگی بتانے کی منزل کی سمجھ پاکر روحانی و اخلاقی سکون پاکر خوشباش رہتا ہے ۔

ਇਸੁਜੁਗਮਹਿਸੋਭਾਨਾਮਕੀਬਿਨੁਨਾਵੈਸੋਭਨਹੋਇ॥
is jug meh sobhaa naam kee bin naavai sobh na ho-ay.
In this world, the glory is obtained through meditating on Naam; true glory is not attained without meditating on God’s Name.
ਜਗਤਵਿਚਨਾਮਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲਹੀਸੋਭਾਮਿਲਦੀਹੈ, ਹਰਿ-ਨਾਮਤੋਂਬਿਨਾਮਿਲੀਹੋਈਸੋਭਾਅਸਲਸੋਭਾਨਹੀਂ।
اِسُجُگمہِسوبھانامکیِبِنُناۄےَسوبھنہوءِ॥
اس عالم میں الہٰی نام مراد سچ اور حقیقت اپنانے سے ہی شہرت نصیبت ہوتی ہے ۔ بغیر سچ اور حقیقت اپنانے کے شہرت حاصل نہیں ہوتی

ਇਹਮਾਇਆਕੀਸੋਭਾਚਾਰਿਦਿਹਾੜੇਜਾਦੀਬਿਲਮੁਨਹੋਇ॥੫॥
ih maa-i-aa kee sobhaa chaar dihaarhay jaadee bilam na ho-ay. ||5||
The glory obtained through this Maya (worldly riches) is very short-lived, it disappears in an instant. ||5||
ਮਾਇਆਦੇਪ੍ਰਤਾਪਨਾਲਮਿਲੀਹੋਈਸੋਭਾਚਾਰਦਿਨਹੀਰਹਿੰਦੀਹੈ, ਇਸਦੇਨਾਸਹੁੰਦਿਆਂਚਿਰਨਹੀਂਲੱਗਦਾ॥੫॥
اِہمائِیاکیِسوبھاچارِدِہاڑےجادیِبِلمُنہوءِ॥੫॥
دنیاوی دولت کی شہرت چار دنوں کی ہوتی ہے ۔ اسے ختم ہوتے زیادہ دیر نہیں لگتی۔

ਜਿਨੀਨਾਮੁਵਿਸਾਰਿਆਸੇਮੁਏਮਰਿਜਾਹਿ॥
jinee naam visaari-aa say mu-ay mar jaahi.
Those who forsake God’s Name depart from this world spiritually dead.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਨੇਹਰਿ-ਨਾਮਭੁਲਾਦਿੱਤਾਉਹਨਾਂਆਤਮਕਮੌਤਸਹੇੜਲਈਉਹਆਤਮਕਮੌਤੇਮਰੇਰਹਿੰਦੇਹਨ,
جِنیِنامُۄِسارِیاسےمُۓمرِجاہِ
جنہوں نے الہٰی نام یعنی سچ اور حقیقت کو بھلا دیا انہوں نے اخلاقی و روحانی موت ہوگئی

ਹਰਿਰਸਸਾਦੁਨਆਇਓਬਿਸਟਾਮਾਹਿਸਮਾਹਿ॥੬॥
har ras saad na aa-i-o bistaa maahi samaahi. ||6||
They do not enjoy the relish of God’s Name and remain in the filth of vices. ||6||
ਜਿਨ੍ਹਾਂਨੂੰਹਰਿ-ਨਾਮਦੇਰਸਦਾਸੁਆਦਨਾਹਆਇਆਉਹਵਿਕਾਰਾਂਦੇਗੰਦਵਿਚਮਸਤਹੁੰਦੇਹਨ, ਜਿਵੇਂਗੰਦਦੇਕੀੜੇਗੰਦਵਿਚ॥੬॥
ہرِرسسادُنآئِئوبِسٹاماہِسماہِ॥੬॥
جنہیں سچ اور حققیت کا لطف نہیں لیا وہ بدیوں اور بدکاریوں کی بدبوبھری زندگی گذارتے ہیں۔ جیسے گندگی کیڑا گندگی میں

ਇਕਿਆਪੇਬਖਸਿਮਿਲਾਇਅਨੁਅਨਦਿਨੁਨਾਮੇਲਾਇ॥
ik aapay bakhas milaa-i-an an-din naamay laa-ay.
Showing mercy, God has engaged some in always meditating on Naam and has united them with Himself.
ਪਰਮਾਤਮਾਨੇਮੇਹਰਕਰਕੇਕਈਆਂਨੂੰਹਰਵੇਲੇਆਪਣੇਨਾਮਵਿਚਲਾਕੇਆਪਹੀਆਪਣੇਚਰਨਾਂਵਿਚਜੋੜਰੱਖਿਆਹੈ।
اِکِآپےبکھسِمِلائِئنُاندِنُنامےلاءِ॥
ایک ایسے خوش قسمت ہیں جنہیں خدا کود اپنی کرم و عنایت سے سچ اور حقیقت میں ہر روز محو ومجذوب رکھتے ہیں۔

ਸਚੁਕਮਾਵਹਿਸਚਿਰਹਹਿਸਚੇਸਚਿਸਮਾਹਿ॥੭॥
sach kamaaveh sach raheh sachay sach samaahi. ||7||
They always meditate on God’s Name, live a truthful life and ultimately merge in the eternal God. ||7||
ਉਹਸਦਾ-ਥਿਰਨਾਮ-ਸਿਮਰਨਦੀਕਮਾਈਕਰਦੇਹਨ, ਸਦਾ-ਥਿਰਨਾਮਵਿਚਟਿਕੇਰਹਿੰਦੇਹਨ, ਹਰਵੇਲੇਹਰੀਵਿਚਹੀਲੀਨਰਹਿੰਦੇਹਨ॥੭॥
سچُکماۄہِسچِرہہِسچےسچِسماہِ॥੭॥
سچ رہے بولائے ۔ سچ مراد خدا سے پیار کریئے ۔ ہونمے ۔ خودی سچے محل۔ سے ٹھکانے (4)
سچی کارکمائی کرتے ہیں سچے رہتے ہیں۔ اور سچے رہ کر سچ میں دھیان لگائے رکھتے ہیں۔

ਬਿਨੁਸਬਦੈਸੁਣੀਐਨਦੇਖੀਐਜਗੁਬੋਲਾਅੰਨ੍ਹ੍ਹਾਭਰਮਾਇ॥
bin sabdai sunee-ai na daykhee-ai jag bolaa anHaa bharmaa-ay.
Without the Guru’s word, God’s praises can neither be heard nor He can be realized; the entire world is wandering in doubt being spiritually blind and dumb.
ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਤੋਂਵਾਂਜਿਆਂਰਹਿਕੇਹਰਿ-ਨਾਮਸੁਣਿਆਨਹੀਂਜਾਸਕਦਾਤੇਪ੍ਰਭੂਵੇਖਿਆਨਹੀਂਜਾਸਕਦਾ।ਜਗਤਮਾਇਆਦੇਮੋਹਵਿਚਅੰਨ੍ਹਾਤੇਬੋਲਾਹੋਰਿਹਾਹੈਤੇ (ਮਾਇਆਦੀਖ਼ਾਤਰ) ਭਟਕਦਾਫਿਰਦਾਹੈ।
بِنُسبدےَسُنھیِئےَندیکھیِئےَجگُبولاانّن٘ہ٘ہابھرماءِ॥
بن سبدے ۔ بغیر سبق وکلام۔بھرمائے ۔ بھٹکن میں رہتا ہے ۔
بغیر سبق وکلام کے عالم دنیاوی دؤلت میں مخمور اصلیت وحقیقت سچ سے اندھا اور بولا بہرہ ہو رہا ہے ۔ یہ حقیقت نہ سنتا ہے نہ دیکھتا ہے وہم وگمان میں بھٹکتا رہتا ہے ۔

ਬਿਨੁਨਾਵੈਦੁਖੁਪਾਇਸੀਨਾਮੁਮਿਲੈਤਿਸੈਰਜਾਇ॥੮॥
bin naavai dukh paa-isee naam milai tisai rajaa-ay. ||8||
The entire world endures misery without meditating on Naam; however, God’s Name is received only through His Will. ||8||
ਨਾਮਤੋਂਖੁੰਝਕੇਜਗਤਦੁੱਖਹੀਸਹਾਰਦਾਰਹਿੰਦਾਹੈ।ਤੇਹਰਿ-ਨਾਮਉਸਹਰੀਦੀਰਜ਼ਾਨਾਲਹੀਮਿਲਸਕਦਾਹੈ॥੮॥
بِنُناۄےَدُکھُپائِسیِنامُمِلےَتِسےَرجاءِ॥੮॥
رجائے ۔فرمان میں۔
سچ اور حقیقت سے گمراہ ہوکر عذاب پاتا ہے ۔ مگر سچ حقیقت اور الہٰی نام رضا سے ہی نصبی ہوتا ہے ۔

ਜਿਨਬਾਣੀਸਿਉਚਿਤੁਲਾਇਆਸੇਜਨਨਿਰਮਲਪਰਵਾਣੁ॥
jin banee si-o chit laa-i-aa say jan nirmal parvaan.
Those who are attunedto the Guru’s word are immaculate and approved in God’s presence.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਨੇਗੁਰੂਦੀਬਾਣੀਨਾਲਆਪਣਾਚਿੱਤਜੋੜਿਆਹੈਉਹਪਵਿਤ੍ਰਜੀਵਨਵਾਲੇਹੋਜਾਂਦੇਹਨਉਹਪ੍ਰਭੂਦੀਹਜ਼ੂਰੀਵਿਚਕਬੂਲਪੈਂਦੇਹਨ।
جِنبانھیِسِءُچِتُلائِیاسےجننِرملپرۄانھُ॥
نرمل۔ پاک۔ پروان۔ منظور ۔چت ۔دل پیار کیا اپنایئیا
جنہوں نے کلام مرشدی میں اپنا دل لگا یا ان کی زندگی پاک ہوگئی انہیں الہٰی قبولیت حاصل ہوگئی ۔

ਨਾਨਕਨਾਮੁਤਿਨ੍ਹ੍ਹਾਕਦੇਨਵੀਸਰੈਸੇਦਰਿਸਚੇਜਾਣੁ॥੯॥੧੩॥੩੫॥
naanak naam tinHaa kaday na veesrai say dar sachay jaan. ||9||13||35||
O’ Nanak, they never forget Naam and are recognized with honor in God’s presence. ||9||13||35||
ਹੇਨਾਨਕ! ਉਹਨਾਂਨੂੰਪ੍ਰਭੂਦਾਨਾਮਕਦੇਭੁੱਲਦਾਨਹੀਂ, ਸਦਾ-ਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਪ੍ਰਭੂਦੇਦਰਤੇਉਹਉੱਘੇਹਨ॥੯॥੧੩॥੩੫॥
نانکنامُتِن٘ہ٘ہاکدےنۄیِسرےَسےدرِسچےجانھُ
۔ درسچےجان ۔ جنہیں الہٰی در کی پہچان ہے اور پہچانے جاتے ہیں۔
اے نانک یہ کبھی الہٰی نام سچ اور حقیقت نہیں بھلاتے اور الہٰی در پر سچے اور حقیقت پرست سمجھے جاتے ہیں۔

ਆਸਾਮਹਲਾ੩॥
aasaa mehlaa 3.
Raag Aasaa, Third Guru:
آسامہلا੩॥

ਸਬਦੌਹੀਭਗਤਜਾਪਦੇਜਿਨ੍ਹ੍ਹਕੀਬਾਣੀਸਚੀਹੋਇ॥
sabdou hee bhagat jaapday jinH kee banee sachee ho-ay.
The devotees whoutter divine words of God’s praises, become known in the world.
ਜਿਨ੍ਹਾਂਦੀਬਾਣੀਹਰੀਦੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਵਾਲੀਹੁੰਦੀਹੈਉਹਭਗਤਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਜਗਤਵਿਚਉਜਾਗਰਹੋਜਾਂਦੇਹਨ
سبدوَہیِبھگتجاپدےجِن٘ہ٘ہکیِبانھیِسچیِہوءِ॥
سبدے ۔کلام سے ہی۔ بھگت ۔ الہٰی خوف میں رہنے والے ۔بھے گت۔ جاپدے ۔ جانے جاتے ہیں۔ شہرت یافتہ۔ بانی۔ بول کلام۔ سچی ۔حقیقی ۔اصلی ۔ آپ اپنا پن
خادمان خدا کی الہٰی نام(سچ وحقیقت) ہی عزت ووقار ہے ۔ ان کی زندگی کامیاب ہوتی ہے اور سب ان کی قدرواحترام کرتے ہیں

ਵਿਚਹੁਆਪੁਗਇਆਨਾਉਮੰਨਿਆਸਚਿਮਿਲਾਵਾਹੋਇ॥੧॥
vichahu aap ga-i-aa naa-o mani-aa sach milaavaa ho-ay. ||1||
Their self-conceit is eradicated from within, they develop faith in Naam and unite with the eternal God. ||1||
ਉਹਨਾਂਦਾਆਪਾ-ਭਾਵਦੂਰਹੋਜਾਂਦਾਹੈ, ਉਹਨਾਂਦਾਮਨਨਾਮਨੂੰਕਬੂਲਕਰਲੈਂਦਾਹੈ,ਤੇਹਰੀਵਿਚਉਹਨਾਂਦਾਮਿਲਾਪਹੋਜਾਂਦਾਹੈ॥੧॥
ۄِچہُآپُگئِیاناءُمنّنِیاسچِمِلاۄاہوءِ॥੧॥
سچ ۔ حقیقت ۔اصلیت۔
کلام ہی خادمان خدا کی پہچان ہے ۔ جن کے بول سچے ہیں اپنے دل سے خودی ختم کرکے نام میں ایمان لاکر اس سے سچ(خدا) سے ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔

ਹਰਿਹਰਿਨਾਮੁਜਨਕੀਪਤਿਹੋਇ॥
har har naam jan kee pat ho-ay.
The devotees attain honor by meditating on God’s Name.
ਪਰਮਾਤਮਾਦੇਭਗਤਾਂਵਾਸਤੇਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਹੀਇੱਜ਼ਤਹੈ,
ہرِہرِنامُجنکیِپتِہوءِ॥
ہرنام ۔ الہٰی سچ ۔ جن ۔ خادم خدمتگار ۔ پت۔ عزت ۔
خادمان خدا کی الہٰی نام(سچ وحقیقت) ہی عزت ووقار ہے ۔

ਸਫਲੁਤਿਨ੍ਹ੍ਹਾਕਾਜਨਮੁਹੈਤਿਨ੍ਹ੍ਹਮਾਨੈਸਭੁਕੋਇ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
safal tinHaa kaa janam hai tinH maanai sabh ko-ay. ||1|| rahaa-o.
Their life is fruitful because everyone adores them. ||1||Pause||
ਉਹਨਾਂਦੀਜ਼ਿੰਦਗੀਕਾਮਯਾਬਹੋਜਾਂਦੀਹੈ, ਹਰੇਕਜੀਵਉਹਨਾਂਦਾਆਦਰ-ਮਾਣਕਰਦਾਹੈ॥੧॥ਰਹਾਉ॥
سپھلُتِن٘ہ٘ہاکاجنمُہےَتِن٘ہ٘ہمانےَسبھُکوءِ॥੧॥رہاءُ॥
سپھل۔ کامیاب ۔ مانے ۔ مانتا ہے
ان کی زندگی کامیاب ہوتی ہے اور سب ان کی قدرواحترام کرتے ہیں (1) رہاؤ

ਹਉਮੈਮੇਰਾਜਾਤਿਹੈਅਤਿਕ੍ਰੋਧੁਅਭਿਮਾਨੁ॥
ha-umai mayraa jaat hai at kroDh abhimaan.
Egoism and selfishness in a personcreates his separate identity from God which brings out extreme anger and arrogance in him.
‘ਮੈਂਮੈਂ, ਮੇਰੀਮੇਰੀ’, ਹੀਪ੍ਰਭੂਨਾਲੋਂਮਨੁੱਖਦਾਵਖੇਵਾਂਬਣਾਦੇਂਦਾਹੈ, ਇਸੇਕਾਰਨਮਨੁੱਖਦੇਅੰਦਰਕ੍ਰੋਧਅਤੇਅਹੰਕਾਰਪੈਦਾਹੋਇਆਰਹਿੰਦਾਹੈ।
ہئُمےَمیراجاتِہےَاتِک٘رودھُابھِمانُ॥
ہومے ۔ خودی ۔ میرا ۔ملکیت ۔ اُت کرودھ۔ نہات غصہ ۔ ابھیمان۔ غرور ۔
۔ کلام ہی خادمان خدا کی پہچان ہے ۔ جن کے بول سچے ہیں اپنے دل سے خودی ختم کرکے نام میں ایمان لاکر اس سے سچ(خدا) سے ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔

ਸਬਦਿਮਰੈਤਾਜਾਤਿਜਾਇਜੋਤੀਜੋਤਿਮਿਲੈਭਗਵਾਨੁ॥੨॥
sabad marai taa jaat jaa-ay jotee jot milai bhagvaan. ||2||
Through the Guru’s teachings, when egoism subsides then duality ends and one’s conscience merges with the light of God. ||2||
ਜਦੋਂਗੁਰ-ਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂ ‘ਮੈਂਮੇਰੀ’ ਦਾਅਭਾਵਹੋਜਾਂਦਾਹੈਤਾਂਵੱਖਰਾ-ਪਨਮੁੱਕਜਾਂਦਾਹੈ, ਹਰਿ-ਜੋਤਿਵਿਚਸੁਰਤਿਲੀਨਹੋਜਾਂਦੀਹੈ, ॥੨॥
سبدِمرےَتاجاتِجاءِجوتیِجوتِمِلےَبھگۄانُ॥੨॥
سبد مرے ۔ کلام سے ختم ہو۔ جات جائے ۔ تو علیحدگی ختم ہوتی ہے ۔ جوتی جوت ملے بھگوا ۔ خدا کا نور سے نور مل جاتا ہے ۔
سبق وکلام مرشد س میں اور میری سوچ ختم ہو جاتی ہے اور انسان کی علیحدگی ختم ہو جاتی ہے اور الہٰی نور سے انسانی نور یکسو ہوجاتی ہے تو الہٰی ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔

ਪੂਰਾਸਤਿਗੁਰੁਭੇਟਿਆਸਫਲਜਨਮੁਹਮਾਰਾ॥
pooraa satgur bhayti-aa safal janam hamaaraa.
My life has become fruitful by meeting and following the perfect Guru’s teachings.
ਪੂਰਨਸੱਚੇਗੁਰਾਂਨੂੰਮਿਲਕੇਮੇਰਾਜਨਮਕਾਮਯਾਬਹੋਗਿਆਹੈ।
پوُراستِگُرُبھیٹِیاسپھلجنمُہمارا॥
پوراستگر ۔ کامل مرشد ۔بھیٹیا۔ ملاپ کیا۔ سپھل جنم۔ زندگی کامیاب
کامل مرشد کے کلام اور ملاپ سے زندگی کو کامیابی ملتی ہے

ਨਾਮੁਨਵੈਨਿਧਿਪਾਇਆਭਰੇਅਖੁਟਭੰਡਾਰਾ॥੩॥
naam navai niDh paa-i-aa bharay akhut bhandaaraa. ||3||
I have attained the wealth of Naam, which is like the nine treasures of the world and my heart is filled with the inexhaustible wealth of Naam. ||3||
ਮੈਂਨੂੰਹਰਿ-ਨਾਮਮਿਲਗਿਆਹੈਜੋਜਗਤਦੇਨੌਹੀਖ਼ਜ਼ਾਨੇਹਨ ,ਅਤੇਅਮੁੱਕਨਾਮ-ਧਨਨਾਲਮੇਰੇਹਿਰਦੇਦੇ) ਖ਼ਜ਼ਾਨੇਭਰੇਹੋਏਹਨ, ॥੩॥
نامُنۄےَنِدھِپائِیابھرےاکھُٹبھنّڈارا॥੩॥
۔ نام نوے ندھ۔ سچ اور حقیقت کے نوخزان ۔ بھرے اگھٹ۔ بھنڈارا۔ نہ ختم ہونے والے خزانے (3)
الہٰی نام یعنی سچ و حقیقت اپنانے سےد نیاوی نو خزانے مل جاتے ہیں جو نام دنیاوی نوخزانوں کی مانند ہے ۔ دل ان خزانوں سے بھر جاتا ہےجو کبھی خالی نہیں ہوتے ۔

ਆਵਹਿਇਸੁਰਾਸੀਕੇਵਾਪਾਰੀਏਜਿਨ੍ਹ੍ਹਾਨਾਮੁਪਿਆਰਾ॥
aavahi is raasee kay vaapaaree-ay jinHaa naam pi-aaraa.
The dealers of this wealth of Naam come to the Guru, whom God’s Name is dear.
ਇਸਨਾਮ-ਧਨਦੇਉਹੀਵਣਜਾਰੇ (ਗੁਰੂਦੇਕੋਲ) ਆਉਂਦੇਹਨਜਿਨ੍ਹਾਂਨੂੰਇਹਨਾਮ -ਧਨਪਿਆਰਾਲੱਗਦਾਹੈ।
آۄہِاِسُراسیِکےۄاپاریِۓجِن٘ہ٘ہانامُپِیارا॥
راس ۔ پونجی ۔ نام پیارا۔ سچ اور حقیقت سے محبت ہے ۔
اس الہٰی نام کے وہی سودا گر آتے ہیں۔ جنہیں الہٰی نام سچ اور حقیقت سے محبت ہے ۔

ਗੁਰਮੁਖਿਹੋਵੈਸੋਧਨੁਪਾਏਤਿਨ੍ਹ੍ਹਾਅੰਤਰਿਸਬਦੁਵੀਚਾਰਾ॥੪॥
gurmukh hovai so Dhan paa-ay tinHaa antar sabad veechaaraa. ||4||
But only those who follow the Guru’s teachings attain this wealth of Naam; because within them is the ability to reflect on the divine word.||4||
ਜੇਹੜਾਮਨੁੱਖਗੁਰੂਦੀਸਰਨਆਪੈਂਦਾਹੈਉਹਨਾਮ-ਧਨਹਾਸਿਲਕਰਲੈਂਦਾਹੈ।ਕਿਉਂਕਿਉਨ੍ਹਾਂਦੇਅੰਦਰਗੁਰ-ਸ਼ਬਦਦੀਵਿਚਾਰਹੈ॥੪॥
گُرمُکھِہوۄےَسودھنُپاۓتِن٘ہ٘ہاانّترِسبدُۄیِچارا॥੪॥
گورمکھ۔ مرید مرشد۔ سودہ۔ جن خادم ۔ تناہ۔ انتر سبدوچار۔ جن کے دل میں کلام کی سمجھ ہے ۔ (4)
جو انسان مرید مرشد ہوجاتا ہے اسے ہی یہ دولت میسر وہتی ہے ۔ ان کے دل میں کلام بس جاتا ہے ۔ اور الہٰی اوصاف کی سمجھ آجاتی ہے ۔

ਭਗਤੀਸਾਰਨਜਾਣਨ੍ਹ੍ਹੀਮਨਮੁਖਅਹੰਕਾਰੀ॥
bhagtee saar na jaananHee manmukh ahaNkaaree.
The self-willed arrogants do not appreciate the value of devotional worship.
ਆਪਣੇਮਨਦੇਪਿੱਛੇਤੁਰਨਵਾਲੇਮਨੁੱਖਅਹੰਕਾਰੀਹੋਜਾਂਦੇਹਨਉਹਪ੍ਰਭੂਦੀਭਗਤੀਦੀਕਦਰਨਹੀਂਸਮਝਦੇ,
بھگتیِسارنجانھن٘ہ٘ہیِمنمُکھاہنّکاریِ॥
منمکھ ۔ خودارادی ۔ خودی پسند
خودی پسند مغرور خدمت خدا کی قدروقیمت نہیں سمجھتا۔

ਧੁਰਹੁਆਪਿਖੁਆਇਅਨੁਜੂਐਬਾਜੀਹਾਰੀ॥੫॥
Dharahu aap khu-aa-i-an joo-ai baajee haaree. ||5||
They are destined to go astray by God Himself; they lose the game of life. ||5||
ਪ੍ਰਭੂਨੇਆਪਹੀਧੁਰੋਂਆਪਣੇਹੁਕਮਨਾਲਉਨ੍ਹਾਂਨੂੰਕੁਰਾਹੇਪਾਦਿੱਤਾਹੈ, ਉਹਜੀਵਨ-ਬਾਜ਼ੀਹਾਰਜਾਂਦੇਹਨ॥੫॥
دھُرہُآپِکھُیائِئنُجوُئےَباجیِہاریِ॥੫॥
۔ کھوآین۔ گمراہ ۔ جوئے بازی ہادی۔ زندگی کا کھیل جوئے میں گنوادیا۔ (5)
خدا نے خود ہی ان کو گمراہ کیا ہوتا ہے وہ جیسے کوئی جو آکھیلنے والا جوئے میں سب کچھ گنوالیتا ہے ایسے ہی مرید من زندگی کی بازی ہار بیٹھتا ہے ۔

ਬਿਨੁਪਿਆਰੈਭਗਤਿਨਹੋਵਈਨਾਸੁਖੁਹੋਇਸਰੀਰਿ॥
bin pi-aarai bhagat na hova-ee naa sukh ho-ay sareer.
Without loving affection for God, devotional worship cannot be done and without it the body cannot be at peace.
ਪ੍ਰਭੂਵਾਸਤੇਪਿਆਰਦੇਬਗੈਰਭਗਤੀਨਹੀਂਕੀਤੀਜਾਸਕਦੀ, ਭਗਤੀਤੋਂਬਿਨਾਸਰੀਰਨੂੰਸੁਖਨਹੀਂਮਿਲਦਾ।
بِنُپِیارےَبھگتِنہوۄئیِناسُکھُہوءِسریِرِ॥
جب دل میں خدا کی محبت نہ تو خدمت خدا بھی نہیں ہو سکتی ۔ لہذا خدمت خدا کے بغیر روحانی سکون حاصل نہیں ہو سکتا ۔

ਪ੍ਰੇਮਪਦਾਰਥੁਪਾਈਐਗੁਰਭਗਤੀਮਨਧੀਰਿ॥੬॥
paraym padaarath paa-ee-ai gur bhagtee man Dheer. ||6||
The wealth of love for Naam is attained by following the Guru’s teachings; the mind becomes steady through devotional worship. ||6||
ਪ੍ਰੇਮਦੀਦਾਤ (ਗੁਰੂਪਾਸੋਂ) ਮਿਲਦੀਹੈ, ਗੁਰੂਦੀਦੱਸੀਹੋਈਭਗਤੀਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲਮਨਵਿਚਸ਼ਾਂਤੀਆਟਿਕਦੀਹੈ॥੬॥
پ٘ریمپدارتھُپائیِئےَگُربھگتیِمندھیِرِ॥੬॥
پریم پدارتھ۔ پیار کی نعمت ۔ گربھگتی ۔ مرشد کے خوف وادب ۔من دھیر۔ مستقل مزاج (6)
الہٰی پیار کی نعمت خدمت مرشد دل کی مستقل مزاجی سے ملتی ہے ۔خدمت خدا وہی کرتا ہے

ਜਿਸਨੋਭਗਤਿਕਰਾਏਸੋਕਰੇਗੁਰਸਬਦਵੀਚਾਰਿ॥
jis no bhagat karaa-ay so karay gur sabad veechaar.
He whom God so blesses, performs devotional worship by reflecting on the Guru’s word.
ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਵਿਚਾਰਕਰਕੇਉਹੀਮਨੁੱਖਪ੍ਰਭੂਦੀਭਗਤੀਕਰਸਕਦਾਹੈਜਿਸਪਾਸੋਂਪ੍ਰਭੂਆਪਭਗਤੀਕਰਾਂਦਾਹੈ,
جِسنوبھگتِکراۓسوکرےگُرسبدۄیِچارِ॥
بھگت ۔الہٰی خوف والی حالت ۔گرسبدے وچار۔ کلام مرشد سمجھ کر۔
جس سے خدا خود کراتا ہے اور کلام مرشد سمجھتا ہے ۔

ਹਿਰਦੈਏਕੋਨਾਮੁਵਸੈਹਉਮੈਦੁਬਿਧਾਮਾਰਿ॥੭॥
hirdai ayko naam vasai ha-umai dubiDhaa maar. ||7||
Then by eradicating ego and duality, he realizes God dwelling in his heart. ||7||
ਤਦਅੰਦਰੋਂਹਉਮੈਤੇਮੇਰ-ਤੇਰਮੁਕਾਜਾਂਦਾਹੈਤੇਹਿਰਦੇਵਿਚਇਕਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਆਵੱਸਦਾਹੈ॥੭॥
ہِردےَایکونامُۄسےَہئُمےَدُبِدھامارِ॥੭॥
ہردے ۔ دل میں ہونمے ۔ دبدھامار۔ خود اور دوہری سوچ ختم کرکے نرالی انوکھی ۔
دل میں واحد خدا کا نام سچ و حقیقت بس جائے تو دوہری سوچ اور خودی مٹ جاتی ہے

ਭਗਤਾਕੀਜਤਿਪਤਿਏਕੋੁਨਾਮੁਹੈਆਪੇਲਏਸਵਾਰਿ॥
bhagtaa kee jat pat ayko naam hai aapay la-ay savaar.
Meditation on God’s Name alone is the social status and honor of the devotees; God Himself adorns their lives.
ਭਗਤਾਂਵਾਸਤੇਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਹੀਉੱਚੀਜਾਤਤੇਕੁਲਹੈ, ਪਰਮਾਤਮਾਆਪਹੀਉਹਨਾਂਦੇਜੀਵਨਨੂੰਸੋਹਣਾਬਣਾਦੇਂਦਾਹੈ।
بھگتاکیِجتِپتِایکد਼نامُہےَآپےلۓسۄارِ॥
جت پت۔ ذات و عزت ۔ ایکو نام۔ واحد سچ و حقیقت (8)
الہٰی نام ہی خادمان خدا کے لئے بلند عظمت اور بلند خاندان ہے ۔ خدا خود ہی اسے درست کرتا ہے

ਸਦਾਸਰਣਾਈਤਿਸਕੀਜਿਉਭਾਵੈਤਿਉਕਾਰਜੁਸਾਰਿ॥੮॥
sadaa sarnaa-ee tis kee ji-o bhaavai ti-o kaaraj saar. ||8||
The devotees always remain in God’s refuge and He accomplishes their tasks as pleases Him. ||8||
ਭਗਤਸਦਾਉਸਪ੍ਰਭੂਦੀਸਰਨਪਏਰਹਿੰਦੇਹਨ, ਜਿਵੇਂਪ੍ਰਭੂਨੂੰਚੰਗਾਲੱਗਦਾਹੈਤਿਵੇਂਉਹਉਹਨਾਂਦਾਹਰੇਕਕੰਮਸਿਰੇਚਾੜ੍ਹਦੇਂਦਾਹੈ॥੮॥
سداسرنھائیِتِسکیِجِءُبھاۄےَتِءُکارجُسارِ॥੮॥
خادمان خدا ہمیشہ اس کی پناہ وسایہ میں رہتے ہیں جیسے رضائے الہٰی ہے ویسے ہی ان کی ہر کام سرے یعنی مکمل کرتا ہے ۔