Urdu-Raw-Page-1087

ਗੁਣਤੇਗੁਣਮਿਲਿਪਾਈਐਜੇਸਤਿਗੁਰਮਾਹਿਸਮਾਇ॥
guntay gun mil paa-ee-ai jay satgur maahi samaa-ay.
If we merge in the true Guru (ponder over Guru’s teachings, with full concentration and devotion) then we can imbibe the precious Naam in us also. ਜੇਸਤਿਗੁਰਵਿਚਲੀਨਹੋਜਾਈਏਤਾਂਤਾਂਪ੍ਰਭੂਦੇਗੁਣਗਾਂਵਿਆਂ, ਪ੍ਰਭੂਦੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਵਿਚਜੁੜਿਆਂ (ਪ੍ਰਭੂਦਾ ‘ਨਾਮ’-ਰੂਪਕੀਮਤੀਪਦਾਰਥ) ਮਿਲਦਾਹੈ।
گُنھ تے گُنھ مِلِ پائیِئےَ جے ستِگُر ماہِ سماءِ ॥
بے ستگر ماہے سمائے ۔ اگر اپنے آپ کو سچے مرشد میں محو ومجذوب کردے ۔ مول۔ قیمت۔ امول۔ نہایت۔بیش قیمت ۔ جسکی قیمت مقرر نہ کی جاسکے ۔
اگر اپنا آپا مرشد کے حوالے کر دیا جائے تو خدا کی حمدوثناہ کرنے سے مراد با اوصاف کے ملاپ سے اوصاف حاصل ہوتا ہے ۔
ਮੋੁਲਿਅਮੋੁਲੁਨਪਾਈਐਵਣਜਿਨਲੀਜੈਹਾਟਿ॥
mol amol na paa-ee-ai vanaj na leejai haat.
But Naam is so invaluable that it cannot be purchased at any price, and it cannot be bought at any shop.
ਪਰ’ਨਾਮ ‘ਬਹੁਮੁਲਾਪਦਾਰਥਹੈ, ਕਿਸੇਕੀਮਤਨਾਲਨਹੀਂਮਿਲਸਕਦਾ, ਕਿਸੇਹੱਟਤੋਂਖ਼ਰੀਦਕੇਨਹੀਂਲਿਆਜਾਸਕਦਾ।
مد਼لِ امد਼لُ ن پائیِئےَ ۄنھجِ ن لیِجےَ ہاٹِ ॥
وتج۔ خریداری ۔ ہاٹھ ۔ دکان
کیونکہ اوساف قیمتا حاصل نہیں ہو سکتے کیونکہ نہایت بیش قیمت ہیں نہ کسی دکان سے خریدا جا سکتا ہے ۔
ਨਾਨਕਪੂਰਾਤੋਲੁਹੈਕਬਹੁਨਹੋਵੈਘਾਟਿ॥੧॥
naanak pooraa tol hai kabahu na hovai ghaat. ||1||
O’ Nanak, it always maintains its full weight and value, which can never decrease. ||1|| ਹੇਨਾਨਕ! (‘ਨਾਮ’ ਦੇਮੁੱਲਦਾ) ਤੋਲਤਾਂਬੱਝਵਾਂਹੈ, ਉਹਕਦੇਘਟਨਹੀਂਸਕਦਾ (ਭਾਵ, ‘ਆਪਾਗੁਰੂਵਿਚਲੀਨਕਰਨਾ’-ਇਹਬੱਝਵਾਂਮੁੱਲਹੈ, ਤੇਇਸਤੋਂਘਟਕੋਈਹੋਰਉੱਦਮ ‘ਨਾਮ’ ਦੀਪ੍ਰਾਪਤੀਲਈਕਾਫ਼ੀਨਹੀਂਹੈ) ॥੧॥
نانک پوُرا تولُ ہےَ کبہُ ن ہوۄےَ گھاٹِ ॥੧॥
۔ تول۔ تخمینہ ۔ پورا۔ مکمل (1)
اے نانک اسکی قیمت مقرر ہے ۔ جو کبھی کم و بیش نہیں ہوتی (1)
ਮਃ੪॥
mehlaa 4. Fourth Guru:
مਃ੪॥
ਨਾਮਵਿਹੂਣੇਭਰਮਸਹਿਆਵਹਿਜਾਵਹਿਨੀਤ॥
naam vihoonay bharmaseh aavahi jaaveh neet.
O’ my friends, they who are devoid of Naam, keep wandering and coming and going in and out of this world i.e. go through a cycle of birth and death forever. ਹੇਭਾਈ, ਜੋਮਨੁੱਖ ‘ਨਾਮ’ ਤੋਂਸੱਖਣੇਹਨਉਹਭਟਕਦੇਹਨ (ਭਟਕਣਾਦੇਕਾਰਨ) ਨਿੱਤਜੰਮਦੇਤੇਮਰਦੇਹਨ (ਭਾਵ, ‘ਵਾਸਨਾ’ ਪੂਰੀਆਂਕਰਨਲਈਜਨਮਮਰਨਦੇਗੇੜਵਿਚਪਏਰਹਿੰਦੇਹਨ)।
نام ۄِہوُنھے بھرمسہِ آۄہِ جاۄہِ نیِت ॥
دہونھے ۔ بغیر۔ بھرمسہ۔ بھٹکتے ہیں۔ آویہہ۔ جاویہہ۔ آواگون ۔ تناسک۔ نیت۔ ہر روز
الہٰی نام ست سچ حق وحقیقت کے بغیر جو صدیوی ہے انسان آواگون اور تناسخ میں بھٹکتا رہتا ہے
ਇਕਿਬਾਂਧੇਇਕਿਢੀਲਿਆਇਕਿਸੁਖੀਏਹਰਿਪ੍ਰੀਤਿ॥
ik baaNDhay ik dheeli-aa ik sukhee-ay har pareet.
There are some, who are bound in the bonds of worldly involvement, some have loosened them somewhat, and some others who are imbued with God’s love, are in peace.
ਸੋ, ਕਈਜੀਵ (ਇਹਨਾਂ ‘ਵਾਸਨਾ’ ਨਾਲ) ਬੱਝੇਪਏਹਨ, ਕਈਆਂਨੇਬੰਧਨਕੁਝਢਿੱਲੇਕਰਲਏਹਨਤੇਕਈਪ੍ਰਭੂਦੇਪਿਆਰਵਿਚਰਹਿਕੇ (ਬਿਲਕੁਲ) ਸੁਖੀਹੋਗਏਹਨ।
اِکِ باںدھے اِکِ ڈھیِلِیا اِکِ سُکھیِۓ ہرِ پ٘ریِتِ ॥
۔ باندھے ۔ غلام۔ ڈھلیا۔کم غلام۔ سکھیئے ۔ آرا م پاتے ہں ۔ ہر پریت۔ خدا سے محبت ہے ۔
کئی دنیایوی بندھوں کے غلام ہیں اور کئی کم بندھوںمیں ہیں ایک خدا کے پریم پیار سے آرام پاتے ہیں۔
ਨਾਨਕਸਚਾਮੰਨਿਲੈਸਚੁਕਰਣੀਸਚੁਰੀਤਿ॥੨॥
naanak sachaa man lai sach karnee sach reet. ||2||
O’ Nanak, the person who develops full faith in God, his conduct and way of life becomes truthful (meditating Naam becomes a tradition of his life). ||2|| ਹੇਨਾਨਕ! ਜਿਹੜਾਮਨੁੱਖਸਦਾ-ਥਿਰਪਰਮਾਤਮਾਨੂੰਆਪਣੇਮਨਵਿਚਪੱਕਾਕਰਲੈਂਦਾਹੈ, ਸਦਾ-ਥਿਰਨਾਮਉਸਵਾਸਤੇਕਰਨ-ਜੋਗਕੰਮਹੈਸਦਾ-ਥਿਰਨਾਮਹੀਉਸਦੀਜੀਵਨ-ਜੁਗਤਿਹੋਜਾਂਦਾਹੈ॥੨॥
نانک سچا منّنِ لےَ سچُ کرنھیِ سچُ ریِتِ ॥੨॥
سچا من ۔ جو خدا میں یقین و ایما ن لاتا ہے ۔ سچ کرنی ۔ سچے نیک پاک اعمال ۔ سچ ریت۔ پاک رسم و رواج۔
اے نانک۔ جو خدا میں یقین وایمان لاتا ہے اسکے اعمال سچے ہو جاتے ہیں اور سچے رسم و رواج ہوجاتے ہیں۔
ਪਉੜੀ॥
pa-orhee.
Pauree:
پئُڑیِ ॥
ਗੁਰਤੇਗਿਆਨੁਪਾਇਆਅਤਿਖੜਗੁਕਰਾਰਾ॥
gur tay gi-aan paa-i-aa atkharhag karaaraa.
O’ my friends, from the Guru I have attained divine wisdom which has served me like a very sturdy and sharp double edged sword. ਹੇਭਾਈ, ਗੁਰਾਂਦੇਪਾਸੋਂਮੈਂਜੋਗਿਆਨਪ੍ਰਾਪਤਕੀਤਾਹੈਉਹਬੜਾਸਖਤਤੇਤੇਜ਼ਤਲਵਾਰਵਰਗਾਹੈ।
گُر تے گِیانُ پائِیا اتِ کھڑگُ کرارا ॥
گیان۔ علم۔ دانش۔ کھڑگ۔ شمشیر۔ تلوار ۔ کراارا۔ سکت۔
مرشد سے علم کی تیز شمشیر حاصل ہوئی جس کی بری تیز دھار ہے
ਦੂਜਾਭ੍ਰਮੁਗੜੁਕਟਿਆਮੋਹੁਲੋਭੁਅਹੰਕਾਰਾ॥
doojaa bharam garh kati-aa moh lobh ahaNkaaraa.
It has dispelled the evil impulses from my mind, as if I have conquered the fortress of duality, doubt, worldly attachment, greed, and egotism. ਇਸਨੇਮਾਇਆਦੀਖ਼ਾਤਰਭਟਕਣਾਰੂਪਕਿਲ੍ਹਾ, ਮੋਹ, ਲੋਭਤੇਅਹੰਕਾਰਨੂੰਕਟਲਿਆਹੈ।
دوُجا بھ٘رمُ گڑُ کٹِیا موہُ لوبھُ اہنّکارا ॥
بھرم گڑ۔ وہم وگمان کا قلعہ ۔ کٹیا۔ گرائیا۔ موہ۔ دنیاوی محبت۔ لوبھ۔ لالچ ۔ اہنکار۔ غرور۔ تکبر ۔
۔ جس نے وہم و گمان کا قلعہ مسمار کر دیا دنیاوی دولت کی محبت لالچ اور تکبر و غرور میں محصور تھا۔ یا جسکی دیواریں ان سے بنی ہوئی تھیں۔
ਹਰਿਕਾਨਾਮੁਮਨਿਵਸਿਆਗੁਰਸਬਦਿਵੀਚਾਰਾ॥
har kaa naam man vasi-aa gur sabad veechaaraa.
By reflecting on the Guru’s word, God’s Name has come to reside in my mind. ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਵਿਚਸੁਰਤਜੋੜਿਆਂਮੇਰੇਮਨਵਿਚਪਰਮਾਤਮਾਦਾਨਾਮਵੱਸਪਿਆਹੈ।
ہرِ کا نامُ منِ ۄسِیا گُر سبدِ ۄیِچارا ॥
گر سبدویچار۔ کلام رمشد کو سوچ سمجھ کر۔
کلام یا سبق مرشد کو سچ سمجھ کرکر اہی ہم خدا کو اپنے دل میں بسا سکتے ہیں۔
ਸਚਸੰਜਮਿਮਤਿਊਤਮਾਹਰਿਲਗਾਪਿਆਰਾ॥
sach sanjam mat ootmaa har lagaa pi-aaraa.
By practicing truth and self discipline, my intellect has become sublime and God has become dear to me. ਸਚਤੇਸੰਜਮਨਾਲਮੇਰੀਮੱਤਚੰਗੀਹੋਗਈਹੈ, ਰੱਬਮੈਂਨੂੰਪਿਆਰਾਲੱਗਣਲੱਗਗਿਆਹੈ।
سچ سنّجمِ متِ اوُتما ہرِ لگا پِیارا ॥
سچ سنجم۔ حقیقت اور ضبط سے ۔ مت اتما۔ عقل وہوش بلند و برتر ۔
الہٰی نام ست سچ و حقیقت دل میں بسا اور سچ و ضبط اختیار کرنے سے عقل بہتر ہوئی
ਸਭੁਸਚੋਸਚੁਵਰਤਦਾਸਚੁਸਿਰਜਣਹਾਰਾ॥੧॥
sabh sacho sach varatdaa sach sirjanhaaraa. ||1||
Now I have realized that God, the Creator of the universe is pervading, everywhere. ||1|| (ਆਖ਼ਰਮੇਰੀਇਹਹਾਲਤਹੋਗਈਹੈਕਿ) ਸਦਾ-ਥਿਰਸਿਰਜਣਹਾਰਮੈਂਨੂੰਹਰਥਾਂਵੱਸਦਾਦਿੱਸਦਾਹੈ॥੧॥
سبھُ سچو سچُ ۄرتدا سچُ سِرجنھہارا ॥੧॥
سچو سچ و رتدد۔ ہر جگہ خدا بستا ہے ۔ سرجنہار۔ پیدا کرنے والا (1)
اور خدا سے پیار پیدا ہوا اور ہر جگہ بستے خدا کا دیدار ہوا۔
ਸਲੋਕੁਮਃ੩॥
salok mehlaa 3.
Shalok, Third Guru:
سلوکُ مਃ੩॥
ਕੇਦਾਰਾਰਾਗਾਵਿਚਿਜਾਣੀਐਭਾਈਸਬਦੇਕਰੇਪਿਆਰੁ॥
kaydaaraa raagaa vich jaanee-ai bhaa-ee sabday karay pi-aar.
O’ my brother (musician), we should consider Kedaara Raag as supreme among the melodies, if (while singing in this tune,) a person develops love for the Guru’s word (and tries to follow it with devotion). ਹੇਭਾਈ! ਕੇਦਾਰਾਰਾਗਨੂੰ (ਹੋਰਬਾਕੀਦੇ) ਰਾਗਾਂਵਿਚਤਾਂਹੀਜਾਣੋ (ਭਾਵ, ਕੇਦਾਰਾਰਾਗਨੂੰਤਾਂਹੀਵਡਿਆਈਏ, ਜੇਇਸਨੂੰਗਾਉਣਵਾਲਾ) ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਵਿਚਪਿਆਰਕਰਨਲੱਗਪਏ,
کیدارا راگا ۄِچِ جانھیِئےَ بھائیِ سبدے کرے پِیارُ ॥
کہدارا راگ۔ ایک راگ ہے ۔ جس میں اور ماردر آگ میں ۔ معمولی فرق ہے ۔ سبدے ۔ کلام۔
کیداراگ کو راگوں میں تبھی سمجھ آئیگا اگر کلام سے محبت ہو۔
ਸਤਸੰਗਤਿਸਿਉਮਿਲਦੋਰਹੈਸਚੇਧਰੇਪਿਆਰੁ॥
satsangat si-o mildo rahai sachay Dharay pi-aar.
He keeps associating with the congregation of saintly persons and imbues himself with the love for God, ਸਤਸੰਗਤਿਕਰਦਾਰਹੇਅਤੇਸਦਾਥਿਰਰਹਿਣਵਾਲੇਪਰਮਾਤਮਾਦਾਪਿਆਰਧਾਰਨਕਰੇ,
ستسنّگتِ سِءُ مِلدو رہےَ سچے دھرے پِیارُ ॥
ست سنگت۔ پاکدامنوں کی صحبت و قربت ۔ سچے ۔ صدیوی خدا سے ۔
وہ اپنے آپ کو پاکدامن لوگوں کی صحبت و قربت سے تعلق کرتا ہے اور اپنے خدا کو اپنے دل میں ہمیشہ کے لئے بسا لیاتا ہے۔
ਵਿਚਹੁਮਲੁਕਟੇਆਪਣੀਕੁਲਾਕਾਕਰੇਉਧਾਰੁ॥
vichahu mal katay aapnee kulaa kaa karay uDhaar.
This way, he removes the dirt of vices from within and emancipates his entire lineage as well. ਅੰਦਰੋਂਆਪਣੀਮੈਲਭੀਕੱਟੇਤੇਆਪਣੀਆਂਕੁਲਾਂਨੂੰਭੀਤਾਰਲਏ,
ۄِچہُ ملُ کٹے آپنھیِ کُلا کا کرے اُدھارُ ॥
مل ۔ ناپاکیزگی ۔ کلا ۔ خاندان۔ نسب۔
اگر دل و دماغ سے ناپاکیزگی دور کردے جائے تو خاندان کو کامیابی حاسل ہوتی ہے
ਗੁਣਾਕੀਰਾਸਿਸੰਗ੍ਰਹੈਅਵਗਣਕਢੈਵਿਡਾਰਿ॥
gunaa kee raas sangrahai avgan kadhai vidaar.
he amasses the capital of virtues and drives away his vices. ਗੁਣਾਂਦੀਪੂੰਜੀਇਕੱਠੀਕਰੇਤੇਔਗੁਣਮਾਰਕੇਕੱਢਦੇਵੇ।
گُنھا کیِ راسِ سنّگ٘رہےَ اۄگنھ کڈھےَ ۄِڈارِ ॥
راس۔ سرمایہ۔ سنگدیئے ۔ اکھٹا کرے ۔ آوگن کیداراراگ۔بد اوصاف ۔ وڈار۔ پھاڑ کر مارے ۔
اوصاف کی دولت جمع کرے اور بد اوصاف مٹا دے ۔
ਨਾਨਕਮਿਲਿਆਸੋਜਾਣੀਐਗੁਰੂਨਛੋਡੈਆਪਣਾਦੂਜੈਨਧਰੇਪਿਆਰੁ॥੧॥
naanak mili-aa so jaanee-ai guroo na chhodai aapnaa doojai na Dharay pi-aar. ||1||
But O’ Nanak, he alone is considered united with God, who never forsakes his Guru and doesn’t love the other worldly riches and power. ||1|| ਹੇਨਾਨਕ! (ਕੇਦਾਰਾਰਾਗਦੀਰਾਹੀਂਰੱਬਵਿਚ) ਜੁੜਿਆਉਸਨੂੰਸਮਝੋਜੋਕਦੇਆਪਣੇਗੁਰੂਦਾਆਸਰਾਨਾਹਛੱਡੇਤੇਮਾਇਆਵਿਚਮੋਹਨਾਹਪਾਏ॥੧॥
نانک مِلِیا سو جانھیِئےَ گُروُ ن چھوڈےَ آپنھا دوُجےَ ن دھرے پِیارُ ॥੧॥
اے نانک۔ ملاپ اسکا سمجھو جو مرشد کا ساتھ اور آسرا نہ چھوڑے ۔ دوئی دوئش سے پیار نہ کرے ۔
ਮਃ੪॥
mehlaa 4.
Fourth Guru:
مਃ੪॥
ਸਾਗਰੁਦੇਖਉਡਰਿਮਰਉਭੈਤੇਰੈਡਰੁਨਾਹਿ॥
saagar daykh-a-u dar mara-o bhai tayrai dar naahi.
O’ God, when I look at this worldly ocean, I die with fear. But when I live under Your fear and respect, then in my mind there is no fear of worldly ocean; (ਹੇਪ੍ਰਭੂ!) ਜਦੋਂਮੈਂ (ਇਸਸੰਸਾਰ-) ਸਮੁੰਦਰਨੂੰਵੇਖਦਾਹਾਂਤਾਂਡਰਨਾਲਸਹਿਮਜਾਂਦਾਹਾਂ (ਕਿਕਿਵੇਂਇਸਵਿਚੋਂਬਚਕੇਲੰਘਾਂਗਾ, ਪਰ) ਤੇਰੇਡਰਵਿਚਰਿਹਾਂ (ਇਸਸੰਸਾਰ-ਸਮੁੰਦਰਦਾਕੋਈ) ਡਰਨਹੀਂਰਹਿਜਾਂਦਾ;
ساگرُ دیکھءُ ڈرِ مرءُ بھےَ تیرےَ ڈرُ ناہِ ॥
ساگر۔ دنیاوی زندگی کو سمبدر سے تشبیح دی ہے ۔ ڈر۔ خوف۔
جب زندگی کے بنیادی سمندر کی طرف نظر جاتی ہے سوچتے ہیں تو خوف محسوس ہوتا ہے مگر اے خدا تیرا خوف رکھنے سے دنیاوی خوف دور ہا جاتا ہے
ਗੁਰਕੈਸਬਦਿਸੰਤੋਖੀਆਨਾਨਕਬਿਗਸਾਨਾਇ॥੨॥
gur kai sabad santokhee-aa naanak bigsaa naa-ay. ||2||
because, by reflecting on Guru’s word, I become content, and O’ Nanak, when I meditate on Naam, I blossom in ecstasy. ||2|| ਕਿਉਂਕਿ, ਹੇਨਾਨਕ! ਗੁਰੂਦੇਸ਼ਬਦਦੀਰਾਹੀਂਮੈਂਸੰਤੋਖਵਾਲਾਬਣਜਾਂਦਾਹਾਂਤੇਪ੍ਰਭੂਦੇਨਾਮਦੀਰਾਹੀਂਮੈਂਖਿੜਦਾਹਾਂ॥੨॥
گُر کےَ سبدِ سنّتوکھیِیا نانک بِگسا ناءِ ॥੨॥
سنتوکھیا۔ صابر۔ وگسا۔ خوش۔ نائے ۔ نام ۔ سچ و حقیقت سے
کیونکہ کلام مرشد سے انسان صابر ہوجاتا ہے ۔ اور خدا کے نام سچ و حقیقت پر عمل کرنے س دل کھلتا ہے (2)
ਮਃ੪॥
mehlaa 4.
Fourth Guru:
مਃ੪॥
ਚੜਿਬੋਹਿਥੈਚਾਲਸਉਸਾਗਰੁਲਹਰੀਦੇਇ॥
charh bohithai chaalsa-o saagar lahree day-ay.
O’ my friends, the world is so embroiled in vices, as if many waves are rising in this ocean, but by riding the Guru’s ship and following his advice, I would cross over and achieve salvation,
ਹੇਭਾਈ, (ਸੰਸਾਰ-) ਸਮੁੰਦਰ (ਤਾਂਵਿਕਾਰਾਂਦੀਆਂ) ਠਾਠਾਂਮਾਰਰਿਹਾਹੈਪਰਮੈਂ (ਗੁਰ-ਸ਼ਬਦ-ਰੂਪ) ਜਹਾਜ਼ਵਿਚਚੜ੍ਹਕੇ (ਇਸਸਮੁੰਦਰਵਿਚੋਂ) ਲੰਘਾਂਗਾ,
چڑِ بوہِتھےَ چالسءُ ساگرُ لہریِ دےءِ ॥
بوہتھ ۔ جہاز۔
دنیاوی زندگی کے سمندر میں لہریں اُٹھ رہی ہیں مگر جہاز میں سوار ہو جاؤ۔ مراد سبق و کلام مرشد ایک جہاز ہے ۔ اس پر عمل کرؤ۔ سچے حقیقی جہاز مراد سبق وکلام سے
ਠਾਕਨਸਚੈਬੋਹਿਥੈਜੇਗੁਰੁਧੀਰਕਦੇਇ॥
thaak na sachai bohithai jay gur Dheerak day-ay.
because, if the Guru lends his support, then this boat of truth encounters no obstruction i.e. I would face no difficulty in my spiritual journey. ਜੇਸਤਿਗੁਰਹੌਸਲਾਦੇਵੇਤਾਂਇਸਸੱਚੇਜਹਾਜ਼ਵਿਚਚੜ੍ਹਿਆਂ (ਸਫ਼ਰਵਿਚ) ਕੋਈਰੋਕਨਹੀਂਪਏਗੀ।
ٹھاک ن سچےَ بوہِتھےَ جے گُرُ دھیِرک دےءِ ॥
ٹھاک۔ روک۔ دھیرک۔ حوصلہ ۔ یقین ۔
اوراس پر عمل کرنے سے کوئی رکاوٹ نہیں آتی زندگی میں اگر مرشد یقین حوصلہ افزائی کرے ۔
ਤਿਤੁਦਰਿਜਾਇਉਤਾਰੀਆਗੁਰੁਦਿਸੈਸਾਵਧਾਨੁ॥
titdar jaa-ay utaaree-aa gur disai saavDhaan.
I can see that my Guru is keeping watch so he would surely ferry me across to God’s abode. ਮੈਨੂੰਆਪਣਾਗੁਰੂਸੁਚੇਤਦਿੱਸਰਿਹਾਹੈ (ਮੈਨੂੰਨਿਸ਼ਚਾਹੈਕਿਗੁਰੂਮੈਨੂੰ) ਉਸ (ਪ੍ਰਭੂਦੇ) ਦਰਤੇਜਾਉਤਾਰੇਗਾ।
تِتُ درِ جاءِ اُتاریِیا گُرُ دِسےَ ساۄدھانُ ॥
سادھان۔ ہوشیار۔ بیدار۔
مرشد ہوشیار نظر آتا ہے وہ وہان پہنچا ئے گا۔

ਨਾਨਕਨਦਰੀਪਾਈਐਦਰਗਹਚਲੈਮਾਨੁ॥੩॥
naanak nadree paa-ee-ai dargeh chalai maan. ||3||
But O’ Nanak, it is only by His grace that we get to (this Guru’s ship), and thus we get honor in the presence of God. ||3||
ਹੇਨਾਨਕ! (ਇਹਗੁਰ-ਸ਼ਬਦਦਾਜਹਾਜ਼) ਪ੍ਰਭੂਦੀਮਿਹਰਨਾਲਮਿਲਦਾਹੈ (ਇਸਦੀਬਰਕਤਿਨਾਲ) ਪ੍ਰਭੂਦੀਹਜ਼ੂਰੀਵਿਚਆਦਰਮਿਲਦਾਹੈ॥੩॥
نانک ندریِ پائیِئےَ درگہ چلےَ مانُ ॥੩॥
مان ۔ وقار۔ (3)
اے نانک۔ خدا کی نظر عنایت و شفقت حاصل ہوتا ہے بارگاہ خدا میں وقار حاصل ہوتا ہے (3)
ਪਉੜੀ॥
pa-orhee.
Pauree:
پئُڑیِ ॥
ਨਿਹਕੰਟਕਰਾਜੁਭੁੰਚਿਤੂਗੁਰਮੁਖਿਸਚੁਕਮਾਈ॥
nihkantak raaj bhunch too gurmukh sach kamaa-ee.
O’ man, by following Guru’s teachings, earn the remembrance of God, and in this way) enjoy your kingdom of bliss free of any worry, ਹੇਭਾਈ, ਗੁਰੂਦੇਸਨਮੁਖਹੋਕੇਸਿਮਰਨਦੀਕਮਾਈਕਰ (ਤੇਇਸਤਰ੍ਹਾਂ) ਨਿਰਚੋਭਰਾਜਮਾਣ,
نِہکنّٹک راجُ بھُنّچِ توُ گُرمُکھِ سچُ کمائیِ ॥
نہکنٹک ۔ بلا دکھ تکلیف ۔ راج۔ ھکمرای ۔ بھنچ ۔ کر ۔ زیر تصرف۔ لا ۔ سچ کمائی۔ حقیقت اپنا سچی کمائی حقی کر۔
اے انسان بلا خوف و خطر حکمرای کر مرشد کے وسیلے سے سچ کما ۔
ਸਚੈਤਖਤਿਬੈਠਾਨਿਆਉਕਰਿਸਤਸੰਗਤਿਮੇਲਿਮਿਲਾਈ॥
sachai takhat baithaa ni-aa-o kar satsangat mayl milaa-ee.
because God who is doing justice sitting on the eternal throne, would unite you with the congregation of saintly persons. (ਕਿਉਂਕਿ) ਜੋਪ੍ਰਭੂਸਦਾ-ਥਿਰਤਖ਼ਤਤੇਬਹਿਕੇਨਿਆਂਕਰਰਿਹਾਹੈਉਹਤੈਨੂੰਸਤਸੰਗਵਿਚਮਿਲਾਦੇਵੇਗਾ|
سچےَ تکھتِ بیَٹھا نِیاءُ کرِ ستسنّگتِ میلِ مِلائیِ ॥
نیاو۔ انصاف۔
خدا تخت پر بیٹھ کر انصاف کرتا ہے وہ تجھے پاکدامنوں کی صحبت مہیا کرادیگا۔
ਸਚਾਉਪਦੇਸੁਹਰਿਜਾਪਣਾਹਰਿਸਿਉਬਣਿਆਈ॥
sachaa updays har jaapnaa har si-o ban aa-ee.
By acting on the Guru’s true teachings and meditating on God, you would realize God. ਓਥੇਨਾਮ-ਸਿਮਰਨਦੀਸੱਚੀਸਿੱਖਿਆਕਮਾਇਆਂਤੇਰੀਪ੍ਰਭੂਨਾਲਬਣਆਵੇਗੀ।
سچا اُپدیسُ ہرِ جاپنھا ہرِ سِءُ بنھِ آئیِ ॥
سچا اُپدیش ۔ سچی حقیقی واعظ پندو نصائج۔ بن ۔ ا تفاق ۔
سچا سبق سچی واعظ و نصیحت ہے یادویاریض خدا ہے اس سے خدا سے تیرا تعلق ار رشتہ پیدار ہو جائیگا۔
ਐਥੈਸੁਖਦਾਤਾਮਨਿਵਸੈਅੰਤਿਹੋਇਸਖਾਈ॥
aithai sukh-daata man vasai ant ho-ay sakhaa-ee.
Here in this life, the bliss giving God would come to reside in your heart, and He would be helpful to you in the end i.e. at the time of death. ਇਸਜੀਵਨਵਿਚਸੁਖਦਾਤਾਰੱਬਮਨਵਿਚਵੱਸੇਗਾਤੇਅੰਤਵੇਲੇਭੀਸਾਥੀਬਣੇਗਾ।
ایَتھےَ سُکھداتا منِ ۄسےَ انّتِ ہوءِ سکھائیِ ॥
سکھائی۔ ساتھی ۔
اس زندگی میں خدا دل میں بس جائیگا اور بوقت آخرت ساتھی اور مددگار ہوگا
ਹਰਿਸਿਉਪ੍ਰੀਤਿਊਪਜੀਗੁਰਿਸੋਝੀਪਾਈ॥੨॥
har si-o pareet oopjee gur sojhee paa-ee. ||2||
The person whom the Guru has imparted the right understanding, develops love for God in his mind. ||2|| ਜਿਸਮਨੁੱਖਨੂੰਸਤਿਗੁਰੂਨੇਸਮਝਬਖ਼ਸ਼ੀਉਸਦਾਪ੍ਰਭੂਨਾਲਪਿਆਰਬਣਜਾਂਦਾਹੈ॥੨॥
ہرِ سِءُ پ٘ریِتِ اوُپجیِ گُرِ سوجھیِ پائیِ ॥੨॥
اپجی ۔ پیدا ہوئی۔ سوجہی ۔ سمجھ (2)
۔ جسے سچے مرشد نے سمجھ بخشی اسکا خدا سے پیار ہوگیا (2)
ਸਲੋਕੁਮਃ੧॥
salok mehlaa 1.
Shalok, First Guru:
سلوکُ مਃ੧॥
ਭੂਲੀਭੂਲੀਮੈਫਿਰੀਪਾਧਰੁਕਹੈਨਕੋਇ॥
bhoolee bhoolee mai firee paaDhar kahai na ko-ay.
(Using analogy of a traveler Guru Ji says,) I am roaming around lost and strayed from my spiritual path, but no one tells me the right way, ਬਥੇਰੇਚਿਰਤੋਂਖੁੰਝੀਹੋਈਮੈਂਭਟਕਰਹੀਹਾਂ, ਮੈਨੂੰਕੋਈਪੱਧਰਾਰਾਹਨਹੀਂਦੱਸਦਾ
بھوُلیِ بھوُلیِ مےَ پھِریِ پادھرُ کہےَ ن کوءِ ॥
بھولی بھولی ۔ گمراہی میں۔ پادھر۔ صحیح راستہ ۔
بہت عرصہ گمراہ رہا مجھے کس نے درست راہ نہیں بتاتا۔
ਪੂਛਹੁਜਾਇਸਿਆਣਿਆਦੁਖੁਕਾਟੈਮੇਰਾਕੋਇ॥
poochhahu jaa-ay si-aani-aa dukh kaatai mayraa ko-ay.
Maybe, I should go and ask some wise persons, perhaps someone may rid me of my misery and tell me the right path. ਜਾਕੇਕਿਸੇਸਿਆਣੇਬੰਦਿਆਂਨੂੰਪੁਛਦੀਹਾਂ, ਭਲਾਜੇਕੋਈਮੇਰਾਕਸ਼ਟਕੱਟਦੇਵੇ।
پوُچھہُ جاءِ سِیانھِیا دُکھُ کاٹےَ میرا کوءِ ॥
سیانیا۔ دانشمندان ۔
دانشمندوں سے پوچھو جس سے میرا عذآب دور ہو جائے ۔
ਸਤਿਗੁਰੁਸਾਚਾਮਨਿਵਸੈਸਾਜਨੁਉਤਹੀਠਾਇ॥
satgur saachaa man vasai saajan ut hee thaa-ay.
I know that if the true Guru comes to reside in mind, then the beloved God is also found there, ਜੇਸੱਚਾਗੁਰੂਮਨਵਿਚਆਵੱਸੇਤਾਂਸੱਜਣਪ੍ਰਭੂਭੀਓਸੇਥਾਂ (ਭਾਵ, ਹਿਰਦੇਵਿਚਹੀ) ਮਿਲਪੈਂਦਾਹੈ,
ستِگُرُ ساچا منِ ۄسےَ ساجنُ اُت ہیِ ٹھاءِ ॥
ستگر۔ سچا مرشد ۔ جن ۔ دوست۔ اُت ہی ٹھائے ۔ اسی جگہ ۔
اے نانک اگر سچا مرشد دل میں بس جائے تو دوست وہیں ہے ۔
ਨਾਨਕਮਨੁਤ੍ਰਿਪਤਾਸੀਐਸਿਫਤੀਸਾਚੈਨਾਇ॥੧॥
naanak man tariptaasee-ai siftee saachai naa-ay. ||1||
then O’ Nanak, by praising God and meditating on Naam, one’s mind is satiated. ||1||
ਹੇਨਾਨਕ! ਪ੍ਰਭੂਦੀਸਿਫ਼ਤ-ਸਾਲਾਹਕਰਨਨਾਲਤੇਪ੍ਰਭੂਦਾਨਾਮਸਿਮਰਿਆਂਮਨਭਟਕਣੋਂਹਟਜਾਂਦਾਹੈ॥੧॥
نانک منُ ت٘رِپتاسیِئےَ سِپھتیِ ساچےَ ناءِ ॥੧॥
ترپتا سیئے ۔ تسکین پاتا ہے ۔ تسلی ہو جاتی ہے ۔ صفتی ساچے ۔ سچے نام کی صفت صلاح کرنے سے ۔
اے نانک۔ سچے نام سچ حق و حقیقت کو تسکین ملتی اور تسلی ہو جاتی ہے ۔
ਮਃ੩॥
mehlaa 3.
Third Guru:
مਃ੩॥
ਆਪੇਕਰਣੀਕਾਰਆਪਿਆਪੇਕਰੇਰਜਾਇ॥
aapay karnee kaar aap aapay karay rajaa-ay.
O’ my friends, God does whatever is worth doing as per His own will. ਹੇਭਾਈ, ਪ੍ਰਭੂਆਪਣੀਰਜ਼ਾਵਿਚਆਪਹੀਕਰਨ-ਜੋਗਕਾਰਕਰਦਾਹੈ,
آپے کرنھیِ کار آپِ آپے کرے رجاءِ ॥
کرنی ۔ کار لائق۔
خدا اپنی رضا سے جو کام اسکے کار لائق ہوتا ہے کرتا ہے
ਆਪੇਕਿਸਹੀਬਖਸਿਲਏਆਪੇਕਾਰਕਮਾਇ॥
aapay kis hee bakhas la-ay aapay kaar kamaa-ay.
On His own, He forgives someone, on His own He does the deed and accomplishes the task. ਆਪਹੀਜੀਵਨੂੰਬਖ਼ਸ਼ਦਾਹੈਆਪਹੀਕਾਰਕਮਾਂਦਾਹੈਤੇਉਸਨੂੰਸਿਰੇਲਾਂਉਦਾਹੈ।
آپے کِس ہیِ بکھسِ لۓ آپے کار کماءِ ॥
۔ کار ۔ کام۔ رضائے ۔ مرضی۔
خود ہی کسی کو بخشتا اور کام کرتا ہے
ਨਾਨਕਚਾਨਣੁਗੁਰਮਿਲੇਦੁਖਬਿਖੁਜਾਲੀਨਾਇ॥੨॥
naanak chaanan gur milay dukh bikh jaalee naa-ay. ||2||
O’ Nanak, a person who is blessed with the divine light (guidance) from the Guru, by meditating on Naam he burns away all the suffering caused by the poison of false worldly pursuits. ||2|| ਹੇਨਾਨਕ! ਗੁਰੂਨੂੰਮਿਲਕੇਜਿਸਦੇਹਿਰਦੇਵਿਚਪ੍ਰਕਾਸ਼ਹੁੰਦਾਹੈਉਹ ‘ਨਾਮ’ ਸਿਮਰਕੇਵਿਹੁ-ਰੂਪਮਾਇਆਤੋਂਪੈਦਾਹੋਏਦੁੱਖਸਾੜਦੇਂਦਾਹੈ॥੨॥
نانک چاننھُ گُر مِلے دُکھ بِکھُ جالیِ ناءِ ॥੨॥
چانن۔ روشنی ۔ دکھ ۔ عذاب تکلیف۔ وکھ۔ زہر۔ جالی نائے ۔ سچ و حقیقت الہٰی نام سے جل جاتی ہے (2)
اے نانک۔ ملاپ مرشد سے جسکا ذہن روشن ہو جاتا ہے وہ الہٰی نام ست سچ و حقیقت کی طارقت سے دنیاوی دولت زیلرے اثرات مٹا دیتا ہے (2)
ਪਉੜੀ॥
pa-orhee.
Pauree:
پئُڑیِ ॥
ਮਾਇਆਵੇਖਿਨਭੁਲੁਤੂਮਨਮੁਖਮੂਰਖਾ॥
maa-i-aa vaykh na bhul too manmukh moorkhaa.
O’ self-willed fool, do not be misled seeing the false worldly riches and power, ਹੇਮੂਰਖ! ਹੇਮਨਦੇਗ਼ੁਲਾਮ! ਮਾਇਆਨੂੰਵੇਖਕੇਉਕਾਈਨਾਹਖਾਹ,
مائِیا ۄیکھِ ن بھُلُ توُ منمُکھ موُرکھا ॥
بھل ۔گمراہ۔ منمکھ ۔مرید من۔ مورکھا ۔ بیوقوف ۔
اے مرید من جاہل انسان مائیا دیکھ کر گمراہ نہ ہو۔
ਚਲਦਿਆਨਾਲਿਨਚਲਈਸਭੁਝੂਠੁਦਰਬੁਲਖਾ॥
chaldi-aa naal na chal-ee sabhjhoothdarab lakhaa.
While departing from this world, none of this false wealth of many millions would accompany you. ਇਹ (ਏਥੋਂ) ਤੁਰਨਵੇਲੇਕਿਸੇਦੇਨਾਲਨਹੀਂਤੁਰਦੀ, ਸੋ, ਸਾਰੇਧਨਨੂੰਝੂਠਾ (ਸਾਥੀ)ਜਾਣ।
چلدِیا نالِ ن چلئیِ سبھُ جھوُٹھُ دربُ لکھا ॥
درب۔ دولت ۔
بوقت رحلت و رخصت یہ کسی کے ساتھ نہیں جاتی یہ سارا سرمایہ جھوٹا سمجھ
ਅਗਿਆਨੀਅੰਧੁਨਬੂਝਈਸਿਰਊਪਰਿਜਮਖੜਗੁਕਲਖਾ॥
agi-aanee anDh na boojh-ee sir oopar jam kharhag kalkhaa.
But the ignorant foolish person doesn’t realize that the sword of death is hanging on his head. ਪਰਮੂਰਖਅੰਨ੍ਹਾਮਨੁੱਖਨਹੀਂਸਮਝਦਾਕਿਸਿਰਉਤੇਜਮਦੀਮੌਤਦੀਤਲਵਾਰਭੀਹੈ।
اگِیانیِ انّدھُ ن بوُجھئیِ سِر اوُپرِ جم کھڑگُ کلکھا ॥
اگیانی ۔ بے علم۔ نادان ۔ اندھ۔ عقل سے اندھا بجھئی ۔ سمجھتا ہیں۔ گھڑگ۔ تولار۔ شمشر
۔ بے علم عقل سے اندھا انسان نہیں سمجھتا کہ وت کی تلوار سر پر گھڑی ہے ۔
ਗੁਰਪਰਸਾਦੀਉਬਰੇਜਿਨਹਰਿਰਸੁਚਖਾ॥
gur parsaadee ubray jin har ras chakhaa.
Only those, who have tasted the relish of God’s Name, are saved by Guru’s grace from drowning in the sea of false worldly riches. ਜਿਨ੍ਹਾਂਮਨੁੱਖਾਂਨੇਹਰਿ-ਨਾਮਦਾਰਸਚੱਖਿਆਹੈਉਹਗੁਰੂਦੀਮਿਹਰਨਾਲ (ਮਾਇਆਵਿਚਮੋਹਪਾਣਦੀਉਕਾਈਤੋਂ) ਬਚਜਾਂਦੇਹਨ।
گُر پرسادیِ اُبرے جِن ہرِ رسُ چکھا ॥
جنہوں نے الہٰی لطف کا مزہ لیا رحمت مرشد سے بچتے رہے ۔