Urdu-Raw-Page-62

ਸਰਬੇ ਥਾਈ ਏਕੁ ਤੂੰ ਜਿਉ ਭਾਵੈ ਤਿਉ ਰਾਖੁ ॥
sarbay thaa-ee ayk tooN ji-o bhaavai ti-o raakh.
In all places, You are the One and Only. As it pleases You, Lord, please save and protect me!
سربےتھائیِایکُتوُنّجِءُبھاۄےَتِءُراکھُ॥
آسمان۔ پریم۔ رضا
(7) اے خدا تو آسمان زیر زمین اور تینوں عالموں میں بستا ہے ۔ اور خود ہی الہٰی عشق کے پریم پیار سے خودہی ملا لیتا ہے ۔ سب جگہ بستا ہے جس سے تیری رضا ہے ویسے ہی بچاؤ ۔

ਗੁਰਮਤਿ ਸਾਚਾ ਮਨਿ ਵਸੈ ਨਾਮੁ ਭਲੋ ਪਤਿ ਸਾਖੁ ॥
gurmat saachaa man vasai naam bhalo pat saakh.
Through the Guru’s Teachings, the True One abides within the mind. The Companionship of the Naam brings the most excellent honor.
گُرمتِساچامنِۄسےَنامُبھلوپتِساکھُ॥
سبق۔ نیکنامی
اگر سبق مرشد دل میں بس جائے تو نیکنامی اور عزت ہے ۔

ਹਉਮੈ ਰੋਗੁ ਗਵਾਈਐ ਸਬਦਿ ਸਚੈ ਸਚੁ ਭਾਖੁ ॥੮॥
ha-umai rog gavaa-ee-ai sabad sachai sach bhaakh. ||8||
Eradicate the disease of egotism, and chant the True Shabad, the Word of the True Lord. ||8||
With recitation of shabad, you will eradicate the disease of egotism, and recite the Shabad, the Word of the Creator. ||8||
You will eradicate the disease of egoism, through the recitation of Shabad, the word of the creator.
ہئُمےَروگُگۄائیِئےَسبدِسچےَسچُبھاکھُ॥੮॥
صفت۔ صلاح۔ خودی
اور سبق مرشد سے ہی صفت صلاح سے خودی مٹتی ہے ۔

ਆਕਾਸੀ ਪਾਤਾਲਿ ਤੂੰ ਤ੍ਰਿਭਵਣਿ ਰਹਿਆ ਸਮਾਇ ॥
aakaasee paataal tooN taribhavan rahi-aa samaa-ay.
You are pervading throughout the Akaashic Ethers, the nether regions and the three worlds.
آکاسیِپاتالِتوُنّت٘رِبھۄنھِرہِیاسماءِ॥
زمین آسمان۔ عالموں
(8) اے خدا تو ہی زمین آسمان اور زیر زمین اور تینوں عالموں میں بستا ہے ۔

ਆਪੇ ਭਗਤੀ ਭਾਉ ਤੂੰ ਆਪੇ ਮਿਲਹਿ ਮਿਲਾਇ ॥
aapay bhagtee bhaa-o tooN aapay mileh milaa-ay.
You Yourself are bhakti, loving devotional worship. You Yourself unite us in Union with Yourself.
آپےبھگتیِبھاءُتوُنّآپےمِلہِمِلاءِ॥
بھگتی۔ بخشش
بھگتی بخشتا ہے ۔ اور اپنا بخشش کرکے خود ہی اپنے ساتھ ملاتا ہے ۔

ਨਾਨਕ ਨਾਮੁ ਨ ਵੀਸਰੈ ਜਿਉ ਭਾਵੈ ਤਿਵੈ ਰਜਾਇ ॥੯॥੧੩॥
naanak naam na veesrai ji-o bhaavai tivai rajaa-ay. ||9||13||
O Nanak, may I never forget the Naam! As is Your Pleasure, so is Your Will. ||9||13||
نانکنامُنۄیِسرےَجِءُبھاۄےَتِۄےَرجاءِ
رضائے الہٰی۔ ویسا
اے نانک جس سے رضائے الہٰی ہے ویسا ہوتا ہے تیرا نام نہ بھولوں ۔

ਸਿਰੀਰਾਗੁ ਮਹਲਾ ੧ ॥
sireeraag mehlaa 1.
Siree Raag, First Mehl:
Siree Raag, through First Guru:

ਰਾਮ ਨਾਮਿ ਮਨੁ ਬੇਧਿਆ ਅਵਰੁ ਕਿ ਕਰੀ ਵੀਚਾਰੁ ॥
raam naam man bayDhi-aa avar ke karee veechaar.
My mind is pierced through by the Name of the Lord. What else should I contemplate?
My mind is pierced through by the Naam, what else is there to contemplate?
رامنامِمنُبیدھِیااۄرُکِکریِۄیِچارُ॥
اور ۔ ویچار ۔ اسکے علاوہ خیال ۔
میرا دل رام نام نےباندھ دیا ہے میں اس کے علاوہ اب کیا سوچوں

ਸਬਦ ਸੁਰਤਿ ਸੁਖੁ ਊਪਜੈ ਪ੍ਰਭ ਰਾਤਉ ਸੁਖ ਸਾਰੁ ॥
sabad surat sukh oopjai parabh raata-o sukh saar.
Focusing your awareness on the Shabad, happiness wells up. Attuned to God, the most excellent peace is found.
Who is embued in love of Creator, finds inner peace and happiness.
سبدسُرتِسُکھُاوُپجےَپ٘ربھراتءُسُکھسار
پربھ راتوؤ ۔ الہٰی پیار میں مخسور ۔
گرو کے شبد پر غور کرنے سے راحت ملتی ہے مالک سے پیار سے اعلی درجے کی مسرت میسر آتی ہے

ਜਿਉ ਭਾਵੈ ਤਿਉ ਰਾਖੁ ਤੂੰ ਮੈ ਹਰਿ ਨਾਮੁ ਅਧਾਰੁ ॥੧॥
ji-o bhaavai ti-o raakh tooN mai har naam aDhaar. ||1||
As it pleases You, please save me, Lord. The Name of the Lord is my Support. ||1||
O’ God, let my mind humbly accpept your message, and make the Naam as Support. ||1||
جِءُبھاۄےَتِءُراکھُتوُنّمےَہرِنامُادھارُ॥੧॥
سار ۔ بنیاد ۔ ادھا۔آسرا ۔
جیسے تیری رضا ہو مجھے اسی طرح رکھ میں نے تو ہری کے نام کاہی سہارا لیا ہے۔

ਮਨ ਰੇ ਸਾਚੀ ਖਸਮ ਰਜਾਇ ॥
man ray saachee khasam rajaa-ay.
O mind, the Will of our Lord and Master is true.
O’ mind, accept and walk in the will of the Creator.
منرےساچیِکھسمرجاءِ
ساچی خصم رضائے ۔
اے میرے دل مالک کی رضا سچی ہے۔

ਜਿਨਿ ਤਨੁ ਮਨੁ ਸਾਜਿ ਸੀਗਾਰਿਆ ਤਿਸੁ ਸੇਤੀ ਲਿਵ ਲਾਇ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥
jin tan man saaj seegaari-aa tis saytee liv laa-ay. ||1|| rahaa-o.
Focus your love upon the One who created and adorned your body and mind. ||1||Pause||
جِنِتنُمنُساجِسیِگارِیاتِسُسیتیِلِۄلاءِ॥੧॥رہاءُ॥
سچی رضآئے ۔ الہٰی ۔ سگاریا۔
جس نے جسم و جان پیدا کئے ہیں اور ان کو مزین کیا ہے اس سے اپنی لو لگا

ਤਨੁ ਬੈਸੰਤਰਿ ਹੋਮੀਐ ਇਕ ਰਤੀ ਤੋਲਿ ਕਟਾਇ ॥
tan baisantar homee-ai ik ratee tol kataa-ay.
If I cut my body into pieces, and burn them in the fire,
تنُبیَسنّترِہومیِئےَاِکرتیِتولِکٹاءِ
سجایا ۔ وینز ۔ آگ
اگر جسم کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے اسے آگ میں جھونک دیا جائے۔

ਤਨੁ ਮਨੁ ਸਮਧਾ ਜੇ ਕਰੀ ਅਨਦਿਨੁ ਅਗਨਿ ਜਲਾਇ ॥
tan man samDhaa jay karee an-din agan jalaa-ay.
and if I make my body and mind into firewood, and night and day burn them in the fire,
تنُمنُسمدھاجےکریِاندِنُاگنِجلاءِ॥
۔ اک رتی تول کٹائے ۔ تھوڑا تھوڑا کرکے کٹائے ۔ سمدھا ۔ لکڑی ۔ اندھ ۔ روز و شب
اور تن من کو ہون کی سامگری بنا کر ہمروزانہ آگ میں ڈالتے رہیں۔

ਹਰਿ ਨਾਮੈ ਤੁਲਿ ਨ ਪੁਜਈ ਜੇ ਲਖ ਕੋਟੀ ਕਰਮ ਕਮਾਇ ॥੨॥
har naamai tul na puj-ee jay lakh kotee karam kamaa-ay. ||2||
and if I perform hundreds of thousands and millions of religious rituals-still, all these are not equal to the Name of the Lord. ||2||
and if I perform hundreds of thousands and millions of religious rituals-still, all these are not equal to the Naam. ||2||
ہرِنامےَتُلِنپُجئیِجےلکھکوٹیِکرمکماءِ॥੨॥
۔ تل نہ پجئی ۔ کے برابرنہ ہوگی ۔ کوٹی ۔کروڑوں ۔
ایسے ہزاروں لاکھوں اور کروڑوں جتن کریں تب بھی ہری کے نام کی برابری نہیں کر سکتے۔

ਅਰਧ ਸਰੀਰੁ ਕਟਾਈਐ ਸਿਰਿ ਕਰਵਤੁ ਧਰਾਇ ॥
araDh sareer kataa-ee-ai sir karvat Dharaa-ay.
If my body were cut in half, if a saw was put to my head,
اردھسریِرُکٹائیِئےَسِرِکرۄتُدھراءِ
(2) کروت۔ آرا ۔
سر پر آرہ چلاکر جسم کے دو ٹکڑے بھی کر دیں۔

ਤਨੁ ਹੈਮੰਚਲਿ ਗਾਲੀਐ ਭੀ ਮਨ ਤੇ ਰੋਗੁ ਨ ਜਾਇ ॥
tan haimanchal gaalee-ai bhee man tay rog na jaa-ay.
and if my body were frozen in the Himalayas-even then, my mind would not be free of disease.
and if my body were frozen in the Himalayas-even then, my mind would not be free of diseases like ego.
تنُہیَمنّچلِگالیِئےَبھیِمنتےروگُنجاءِ॥
ہیمنچل ۔ ہمالیے کی برف میں ۔ تل ۔ برابر

اور اس جسم کو ہمالیہ کی برف میں گلا ڈالیں تب بھی من کا روگ یعنی تکبر دور نہیں ہوتا۔

ਹਰਿ ਨਾਮੈ ਤੁਲਿ ਨ ਪੁਜਈ ਸਭ ਡਿਠੀ ਠੋਕਿ ਵਜਾਇ ॥੩॥
har naamai tul na puj-ee sabh dithee thok vajaa-ay. ||3||
None of these are equal to the Name of the Lord. I have seen and tried and tested them all. ||3||
All the retulastic deeds are not equal to the Naam.I have seen and tried and tested them all. ||3||
ہرِنامےَتُلِنپُجئیِسبھڈِٹھیِٹھوکِۄجاءِ॥੩॥
۔ ٹھوک بجائے ۔ پوری تحقیق سے ۔ کامل امتحان
میں نے اچھی طرح ٹھونک بجا کر دیکھ لیا ہے کہی یہ سارے جتن خدا کے نام کی برابری نہیں کر سکتے۔

ਕੰਚਨ ਕੇ ਕੋਟ ਦਤੁ ਕਰੀ ਬਹੁ ਹੈਵਰ ਗੈਵਰ ਦਾਨੁ ॥
kanchan kay kot dat karee baho haivar gaivar daan.
If I made a donation of castles of gold, and gave lots of fine horses and wondrous elephants in charity,
کنّچنکےکوٹدتُکریِبہُہیَۄرگیَۄردانُ॥
۔ (3) کنچن ۔ سونا ۔ کوٹ ۔ قلعہ ۔ دت ۔ دان سخاوت
سونے کے قلعے نیاز کروں گھوڑے بیل ہاتھی نیاز کروں۔

ਭੂਮਿ ਦਾਨੁ ਗਊਆ ਘਣੀ ਭੀ ਅੰਤਰਿ ਗਰਬੁ ਗੁਮਾਨੁ ॥
bhoom daan ga-oo-aa ghanee bhee antar garab gumaan.
and if I made donations of land and cows-even then, pride and ego would still be within me.
بھوُمِدانُگئوُیاگھنھیِبھیِانّترِگربُگُمانُ॥
۔ ہیور۔ گہوڑا ۔ گیور ۔ ہاتھی ۔ بھوم۔ زمین ۔ گھنی ۔ زیادہ ۔ گربھ ۔ تکبر ۔ غرور ۔گھمنڈ
گائیں بھی دوں پھر بھی غرور دل سے نہیں نکلتا۔

ਰਾਮ ਨਾਮਿ ਮਨੁ ਬੇਧਿਆ ਗੁਰਿ ਦੀਆ ਸਚੁ ਦਾਨੁ ॥੪॥
raam naam man bayDhi-aa gur dee-aa sach daan. ||4||
The Name of the Lord has pierced my mind; the Guru has given me this true gift. ||4||
The Naam has pierced my mind; the Guru has given me this true gift. ||4||
رامنامِمنُبیدھِیاگُرِدیِیاسچُدانُ॥੪॥
میرا نام تو رام نام نے باندھ ڈالا ہے اور یہ سچا دان گرو کے کرم سے حاصل ہوا ہے۔

ਮਨਹਠ ਬੁਧੀ ਕੇਤੀਆ ਕੇਤੇ ਬੇਦ ਬੀਚਾਰ ॥
manhath buDhee kaytee-aa kaytay bayd beechaar.
There are so many stubborn-minded intelligent people, and so many who contemplate the Vedas.
منہٹھبُدھیِکیتیِیاکیتےبیدبیِچار
پنچے ۔ سچ آچار
دل کو کسی اور طرف لگانے کے اور بھی کئی طریقے ہیں ویدوں نے بھی کئی راستے سمجھائے ہیں۔

ਕੇਤੇ ਬੰਧਨ ਜੀਅ ਕੇ ਗੁਰਮੁਖਿ ਮੋਖ ਦੁਆਰ ॥
kaytay banDhan jee-a kay gurmukh mokh du-aar.
There are so many entanglements for the soul. Only as Gurmukh do we find the Gate of Liberation.
There are so many entanglements for the soul. Only as Gurus followers do we find the Gate of Liberation.
کیتےبنّدھنجیِءکےگُرمُکھِموکھدُیار
کرم ۔عنایت ۔ شفقت ۔ رحمت ۔
یہ سب کے سب روح کے بندھن ہیں نجات کا راستہ تو گرو کے لطف و کرم سے ہی کھلتا ہے۔

ਸਚਹੁ ਓਰੈ ਸਭੁ ਕੋ ਉਪਰਿ ਸਚੁ ਆਚਾਰੁ ॥੫॥
sachahu orai sabh ko upar sach aachaar. ||5||
Truth is higher than everything; but higher still is truthful living. ||5||
سچہُاورےَسبھُکواُپرِسچُآچارُ॥੫॥
سچ آچار۔ سچا چال چلن ۔ اعمال ۔ آچار۔ اعمال ۔
تمام علوم صداقت کے علم کی گرد کو بھی نہیں پہنچتے لیکن صداقت کے علم سے نیک اعمال برتر ہیں۔

ਸਭੁ ਕੋ ਊਚਾ ਆਖੀਐ ਨੀਚੁ ਨ ਦੀਸੈ ਕੋਇ ॥
sabh ko oochaa aakhee-ai neech na deesai ko-ay.
Call everyone exalted; no one seems lowly.
سبھُکواوُچاآکھیِئےَنیِچُندیِسےَکوءِ॥
(5) سب کو ۔ ہر ایک کو ۔ بھانڈے ساجیئے ۔پیدا کئے
سبھی کو سرفراز ماننا چاہیے مجھے کوئی نیچ نظر نہیں آتا۔

ਇਕਨੈ ਭਾਂਡੇ ਸਾਜਿਐ ਇਕੁ ਚਾਨਣੁ ਤਿਹੁ ਲੋਇ ॥
iknai bhaaNday saaji-ai ik chaanan tihu lo-ay.
The One Lord has fashioned the vessels, and His One Light pervades the three worlds.
One Creator has fashioned the vessels, and His One Light pervades everywhere.
اِکنےَبھاںڈےساجِئےَاِکُچاننھُتِہُلوءِ॥
چاروں طرف تینوں عالموں میں ہے نور وہی ۔ چانن تیہہ لوئے
ایک خدا نے ہی سب کو پیدا کیا ہے تمام دنیا میں ایک ہی نور پھیلا ہوا ہے۔

ਕਰਮਿ ਮਿਲੈ ਸਚੁ ਪਾਈਐ ਧੁਰਿ ਬਖਸ ਨ ਮੇਟੈ ਕੋਇ ॥੬॥
karam milai sach paa-ee-ai Dhur bakhas na maytai ko-ay. ||6||
Receiving His Grace, we obtain Truth. No one can erase His Primal Blessing. ||6||
Gift of Simran (rememberance) is only obtained with his grace, no one can erase his blessings.||6||
کرمِمِلےَسچُپائیِئےَدھُرِبکھسنمیٹےَکوءِ॥੬॥
کرم ۔عنایت ۔ شفقت ۔ رحمت ۔
یہ صداقت اسی کی رحمت سے ملتی ہے اس کے کرم کو کوئی مٹا نہیں سکتا۔

ਸਾਧੁ ਮਿਲੈ ਸਾਧੂ ਜਨੈ ਸੰਤੋਖੁ ਵਸੈ ਗੁਰ ਭਾਇ ॥
saaDh milai saaDhoo janai santokh vasai gur bhaa-ay.
When one Holy person meets another Holy person, they abide in contentment, through the Love of the Guru.
In the company of Holy, they develop contententment and inner peace, through the love of the Guru.
سادھُمِلےَسادھوُجنےَسنّتوکھُۄسےَگُربھاءِ॥
6) سادھ ۔ پاکدامن ۔ سنتوکھ ۔
اگر سچ کے راستےپر چلنا منظور ہے تو پھر سچے لوگوں کا ساتھ دو۔

ਅਕਥ ਕਥਾ ਵੀਚਾਰੀਐ ਜੇ ਸਤਿਗੁਰ ਮਾਹਿ ਸਮਾਇ ॥
akath kathaa veechaaree-ai jay satgur maahi samaa-ay.
They contemplate the Unspoken Speech, merging in absorption in the True Guru.
They contemplate the Unspoken Speech, merging in absorption in the Guru.
اکتھکتھاۄیِچاریِئےَجےستِگُرماہِسماءِ॥
گر بھائے ۔ رحمت مرشد سے
جو آدمی گرو کی تعلیم میں محو ہو جائے وہ بیان و اظہار سے باہر خدا کی عظمت کو جان سکے گا۔

ਪੀ ਅੰਮ੍ਰਿਤੁ ਸੰਤੋਖਿਆ ਦਰਗਹਿ ਪੈਧਾ ਜਾਇ ॥੭॥
pee amrit santokhi-aa dargahi paiDhaa jaa-ay. ||7||
Drinking in the Ambrosial Nectar, they are contented; they go to the Court of the Lord in robes of honor. ||7||
Drinking in the Ambrosial Nectar of Naam, they are contented; and earn respect and honor in this world and in next. ||7||
پیِانّم٘رِتُسنّتوکھِیادرگہِپیَدھاجاءِ॥੭॥
آب حیات۔ قانع۔ بارگاہ
خدا کے نام کا آب حیات پی کر وہ قانع رہے گا اور اسے خدا کی بارگاہ میں عزت ملے گی۔

ਘਟਿ ਘਟਿ ਵਾਜੈ ਕਿੰਗੁਰੀ ਅਨਦਿਨੁ ਸਬਦਿ ਸੁਭਾਇ ॥
ghat ghat vaajai kinguree an-din sabad subhaa-ay.
In each and every heart the Music of the Lord’s Flute vibrates, night and day, with sublime love for the Shabad.
With the sublime love of Shabad (Hymn) of the Guru, In each and every heart the music vibrates, night and day.
گھٹِگھٹِۄاجےَکِنّگُریِاندِنُسبدِسُبھاءِ॥
بجتی ہے ۔ کنگری ۔ ساز ۔
اگر دن رات شبد کے رنگ میں رنگے رہو گے تو ہر جسم میں اسی کی ستار بجتی ہوئی سنائی دے گی۔

ਵਿਰਲੇ ਕਉ ਸੋਝੀ ਪਈ ਗੁਰਮੁਖਿ ਮਨੁ ਸਮਝਾਇ ॥
virlay ka-o sojhee pa-ee gurmukh man samjhaa-ay.
Only those few who become Gurmukh understand this by instructing their minds.
ۄِرلےکءُسوجھیِپئیِگُرمُکھِمنُسمجھاءِ॥
فہم و ادراک۔ نصیب
لیکن یہ فہم و ادراک کسی کسی کو نصیب ہوتاہے۔

ਨਾਨਕ ਨਾਮੁ ਨ ਵੀਸਰੈ ਛੂਟੈ ਸਬਦੁ ਕਮਾਇ ॥੮॥੧੪॥
naanak naam na veesrai chhootai sabad kamaa-ay. ||8||14||
O Nanak, do not forget the Naam. Practicing the Shabad you shall be saved. ||8||14||
O’ Nanak, do not forget the Naam. Living, moulding your life, controling vices according the Guru’s Shabad (Hymn), you shall be saved. ||8||14||
نانکنامُنۄیِسرےَچھوُٹےَسبدُکماءِ॥੮॥੧੪॥
تعلیم۔ نجات۔
اے نانک جو گرو کی تعلیم پر عمل کرتاہے اور اس کا نام نہیں بھلاتا وہ نجات حاصل کر لیتا ہے۔

ਸਿਰੀਰਾਗੁ ਮਹਲਾ ੧ ॥
sireeraag mehlaa 1.
Siree Raag, First Mehl:
Siree Raag, through First Guru:

ਚਿਤੇ ਦਿਸਹਿ ਧਉਲਹਰ ਬਗੇ ਬੰਕ ਦੁਆਰ ॥
chitay diseh Dha-ulhar bagay bank du-aar.
There are painted mansions to behold, white-washed, with beautiful doors;
چِتےدِسہِدھئُلہربگےبنّکدُیار॥
چتے ۔ چتر کار کئے ہوئے ۔ نقش و نگار کئے ہوئے ۔
اے دل جو یہ محلات جن پر نقش و نگار کیا ہے

ਕਰਿ ਮਨ ਖੁਸੀ ਉਸਾਰਿਆ ਦੂਜੈ ਹੇਤਿ ਪਿਆਰਿ ॥
kar man khusee usaari-aa doojai hayt pi-aar.
they were constructed to give pleasure to the mind, but this is only for the sake of the love of duality.
کرِمنکھُسیِاُسارِیادوُجےَہیتِپِیارِ॥
دھولہہ ۔ محل ۔ بگے ۔ سفید ۔ بتنک ۔ خوبصورت ۔ دوآر ۔ دروازے ۔ اُساریا ۔ بنوایا
جو سفید خوبصورت دروازوں سے آراستہ ہے ۔ جو دلی خوشبوں سے تعمیر کیا ہے۔

ਅੰਦਰੁ ਖਾਲੀ ਪ੍ਰੇਮ ਬਿਨੁ ਢਹਿ ਢੇਰੀ ਤਨੁ ਛਾਰੁ ॥੧॥
andar khaalee paraym bin dheh dhayree tan chhaar. ||1||
The inner being is empty without love. The body shall crumble into a heap of ashes. ||1||
The inner soul is empty wihout love and the body without love is like heap of ashes. ||1||
انّدرُکھالیِپ٘ریمبِنُڈھہِڈھیریِتنُچھارُ॥੧॥
۔ دوبے ۔ دوئی ۔ چھار ۔ راکھ ۔
جبکہ دوئی دویش سے محبت ہے اور پیار سے دل خالی ہے تو آخر مسمار ہو جائیں گے ۔ اسی طرح جو دل پیار سے خالی ہے آخر اس نے ختم ہوکر مٹی میں مل جائیگا ۔۔

ਭਾਈ ਰੇ ਤਨੁ ਧਨੁ ਸਾਥਿ ਨ ਹੋਇ ॥
bhaa-ee ray tan Dhan saath na ho-ay.
O Siblings of Destiny, this body and wealth shall not go along with you.
بھائیِرےتنُدھنُساتھِنہوءِ॥
بھائی۔ تن و دولت
اے بھائی یہ تن و دولت ساتھ نہیں جاتی ۔

ਰਾਮ ਨਾਮੁ ਧਨੁ ਨਿਰਮਲੋ ਗੁਰੁ ਦਾਤਿ ਕਰੇ ਪ੍ਰਭੁ ਸੋਇ ॥੧॥ ਰਹਾਉ ॥
raam naam Dhan nirmalo gur daat karay parabh so-ay. ||1|| rahaa-o.
The Lord’s Name is the pure wealth; through the Guru, God bestows this gift. ||1||Pause||
The Naam is the pure wealth, which remains with you. It is obtained through the Guru, and gift of God. ||1||Pause||
رامنامُدھنُنِرملوگُرُداتِکرےپ٘ربھُسوءِ॥੧॥رہاءُ॥
نر ملو ۔ پاک
الہٰی نام سچ ۔حق و حقیقت جو ایک پاک سرمایہ ہے مگر ملتا اسے ہے جس نے مرشد عنایت کرتا ہے ۔ اورخدا بخشش کرتا ہے

ਰਾਮ ਨਾਮੁ ਧਨੁ ਨਿਰਮਲੋ ਜੇ ਦੇਵੈ ਦੇਵਣਹਾਰੁ ॥
raam naam Dhan nirmalo jay dayvai dayvanhaar.
The Lord’s Name is the pure wealth; it is given only by the Giver.
The Naam is the sacred and precious wealth, it is given only by the Giver.
رامنامُدھنُنِرملوجےدیۄےَدیۄنھہارُ॥
پاک۔ مقدس
الہٰی نام ہے تو پاک اور مقدس مگر جس نے دینے والا ہے جس سے دیدے ۔

ਆਗੈ ਪੂਛ ਨ ਹੋਵਈ ਜਿਸੁ ਬੇਲੀ ਗੁਰੁ ਕਰਤਾਰੁ ॥
aagai poochh na hova-ee jis baylee gur kartaar.
One who has the Guru, the Creator, as his Friend, shall not be questioned hereafter.
آگےَپوُچھنہوۄئیِجِسُبیلیِگُرُکرتارُ॥
۔۔ پوچھ ۔ تحقیق ۔پڑتال ۔ بیلی ۔ دوست ۔
اسکی بوقت عاقبت تحقیقات نہیں ہوتی ۔ جسکا مرشد و خدا ہر دو دوست نہیں ۔

ਆਪਿ ਛਡਾਏ ਛੁਟੀਐ ਆਪੇ ਬਖਸਣਹਾਰੁ ॥੨॥
aap chhadaa-ay chhutee-ai aapay bakhsanhaar. ||2||
He Himself delivers those who are delivered. He Himself is the Forgiver. ||2||
He can only save us from attachment to Maya, He Himself is the Forgiver. ||2||
آپِچھڈاۓچھُٹیِئےَآپےبکھسنھہارُ॥੨॥
(2)سنجوگ۔ ملاپ
وہ خود ہی کرم و عنایت کرنیوالا ہے اور وہی نجات دہندہ ہے ۔