Urdu-Master-27

SGGP. 879-934
رامکلیِ مہلا ੧॥
جا ہرِ پ٘ربھِکِرپادھاریِ॥
تا ہئُمےَ ۄِچہُماریِ॥
سو سیۄکِرامپیاری॥
جو گُر سبدیِ بیِچاریِ ॥੧॥
سو ہرِ جنُ ہرِ پ٘ربھبھاۄےَ॥
اہِنِسِ بھگتِ کرے دِنُ راتیِ لاج چھوڈِ ہرِ کے گُنھ گاۄےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
دھُنِ ۄاجےانہدگھورا॥
منُ مانِیا ہرِ رسِ مورا ॥
گُر پوُرےَ سچُ سمائِیا ॥
گُرُ آدِ پُرکھُ ہرِ پائِیا ॥੨॥
سبھِ ناد بید گُربانھیِ ॥
منُ راتا سارِگپانھیِ ॥
تہ تیِرتھ ۄرتتپسارے॥
گُر مِلِیا ہرِ نِستارے ॥੩॥
جہ آپُ گئِیا بھءُ بھاگا ॥
گُر چرنھیِ سیۄکُلاگا॥
گُرِ ستِگُرِ بھرمُ چُکائِیا ॥
کہُ نانک سبدِ مِلائِیا ॥੪॥੧੦॥
لفظی معنی:
کِرپا دھاریِ۔مہربانی کی ۔ ہومے ۔ خودی ۔ خویشتا ۔ خوئش پن۔ سیوک ۔ خدمتگار۔ رام۔ پیاری ۔ الہٰی محبوب ۔ گر سبدی وچاری ۔ کلام مرشد کی وساطت سے نیک و بد کی سمجھ خیال آرائی (1) ہرجن۔ خادم خدا۔ ہر ہپربھاوئے ۔ خدا کو پیارا ہوجاتا ہے ۔ سو ۔ وہ ۔ اہنس ۔ روز و شب ۔ دن رات۔ بھگت۔ عبادت وریاضت ۔ لاج ۔ حیا ۔ شرم۔ ہر کے گن گاو ے ۔ الہٰی حمدوثناہ کرے (1) رہاؤ۔ دھن ۔ دھنی ۔ سر۔ آواز۔ انحد۔ لگاتار۔ گھور۔ گرج ۔ من ۔ مانیا۔ من کی تسلی ہوئی ۔ ایمان لائیا۔ بھروسا ہوا۔ ہر رس۔ الہٰی لطف۔ گر پورے ۔ کامل مرشد۔ سچ ۔ صدیوی سچا خدا ۔ آدپرکھ ۔ روز اول کی ہستی (2) گربانی ۔ کلام مرشد ۔ سارگ ۔ پانی ۔ خدا۔ راتا۔ محو ومجذوب۔ تیرتھ ۔ زیارت گاہ ۔ ورت پرہیز گاری ۔ تپ ۔ تپسیا ۔ نستارے ۔ کامیاب بناتا ہے ۔ (3) آپ ۔ خودی ۔ خوئشتا ۔ خوئش پن۔ آپا۔ بھوبھاگا۔ خوف دور ہوا۔ گر چرنی ۔ پائے مرشد۔ سیوک۔ خدمتگار ۔ بھرم چکائیا۔ وہم وگمان دور کیا۔ سبد۔کلام۔
ترجمہ معہ تشریح:
محبوب خدا ہوتا ہے وہی خدائی خدمتگار جو ہر روز کرتا ہے حمدو ثناہ خدا کی (1) رہاؤ۔ جس پر ہو کرم و عنایت خدا کی وہ پانی خودی گنواتا ہے ۔ وہ خدا کا محبوب ہوجاتا ہے (1) جب دل الہٰی لطف میں محو ومجذوب ہوگیا تو لگاتار سازوں کی جھنکارا اور گرج سنائی دینے لگی ۔ کامل مرشد (نے ) کے ذریعے صدیوی سچ سچا خدا دلمیں بس گیا ۔ اور مجھے روز اول کی قدیمی ہستی کا ملاپ حاصل ہوا (2) کلام مرشد ہی سارے مذہبی کتابیں ہیں۔ جب محو مجذوب ب ہو خدا میں اسی میں ہی ہے ۔ زیارت پرہیز گاری اور جہد و ریاضت ۔ جسکا ملاپ ہوجائے مرشد سے اسے عنایت کرتا ہے ۔ زندگی میں کامیابی (3) جس نے خوید گنو ادی خوف دور ہوگیا۔ پائے مرشد کا گرویدہ ہ ہوگیا۔ سچے مرشد نے اسکا وہم و گماں مٹا دیا ۔ اے نانک

رامکلیِ مہلا ੧॥
چھادنُ بھوجنُ ماگتُ بھاگےَ ॥
کھُدھِیا دُسٹ جلےَ دُکھُ آگےَ ॥
گُرمتِ نہیِ لیِنیِ دُرمتِ پتِ کھوئیِ ॥
گُرمتِ بھگتِ پاۄےَجنُکوئیِ॥੧॥
جوگیِ جُگتِ سہج گھرِ ۄاسےَ॥
ایک د٘رِسٹِایکوکرِدیکھِیابھیِکھِیا بھاءِ سبدِ ت٘رِپتاسےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
پنّچ بیَل گڈیِیا دیہ دھاریِ ॥
رام کلا نِبہےَ پتِ ساریِ ॥
دھر توُٹیِ گاڈو سِر بھارِ ॥
لکریِ بِکھرِ جریِ منّجھ بھارِ ॥੨॥
گُر کا سبدُ ۄیِچارِجوگیِ॥
دُکھُ سُکھُ سم کرنھا سوگ بِئوگیِ ॥
بھُگتِ نامُ گُر سبدِ بیِچاریِ ॥
استھِرُ کنّدھُ جپےَ نِرنّکاریِ ॥੩॥
سہج جگوٹا بنّدھن تے چھوُٹا ॥
کامُ ک٘رودھُگُرسبدیِلوُٹا॥
من مہِ مُنّد٘راہرِگُرسرنھا॥
نانک رام بھگتِ جن ترنھا ॥੪॥੧੧॥
لفظی معنی:
چھاون ۔ کپڑے ۔ بھوجن۔ کھانا۔ مانگت بھاگے ۔ مانگنے کے لئے دوڑ دہوپ کرتا ہے ۔ کھدیا۔ بھوک۔ دشٹ ۔ بدکار ۔ ہرا۔ گرمت ۔ سبق مرشد۔ بھگت۔ عبادت وریاضت ۔ درمت ۔ بدعقلی ۔ پت۔ عزت (1) جگت ۔ طریقہ ۔ سہج ۔ روحانی یا ذہنی سکون ۔ درسٹ۔ نگاہ نظریہ ۔ ایکو کر دیکھیا ۔ واحد سمجھ کر ۔ بھیکھیا بھائے ۔ پیار کی بھیک ۔ سبد ترپتا سے ۔ کلام یا سبق سے مٹتی ہے (1) رہاؤ۔ پنچ بیل۔ پانچ اعضائے احساس ۔ گدیا ۔ گڈے ۔ دیہہ۔ جسم۔ دھاری ۔ آسرا۔ رام کالا۔ الہٰی توفیق ۔ بنہے ۔ ساتھ دیتی ہے ۔ پت ۔ عزت۔ دھر ٹوی ۔ آسرا ختم ہوا۔ گاڈے سر بھار۔ اڑی الٹ گئی ۔ بکھر ۔ کھلر۔ جری ۔ منجھ بھار۔ اپنے وزن سے جل جاتی ہیں (2) دکھ سکھ ۔ آرام وآسائش و عذاب ۔ سوگ دیوگی ۔ غمی اور جدائی ۔ بگت۔ کھانا۔ نام۔ سچ حق و حقیقت۔ گر سبد وچاری۔ کلام مرشد کی سوچ اور سمجھ ۔ اتھر کندھ ۔ جسم قائم ہوگا (3) ہر گر سرنا ۔ الہٰی پناہ ۔ سہج جگوٹا۔ کرم کسا۔ کمر کے اردو گرد باندھنے والا ۔ اون کارسا۔
ترجمہ معہ تشریح:
جوگ کے جوگ کا طرز زندگی یہ ہے کہ وہ پر سکون رہے وہی اور روحانی طور پر ۔ اور سب کو یکساں طور پر ایک نظر دیکھے کہ خدا سب میں بس رہا ہے ۔ مرشد کے سبق واعظ کی مطابق پریم پیار کی بھیک سے اپنی روحانی بھوک مٹائیے (1) رہاؤ۔ مگر جو کپڑے اور کھتا مانگتا پھرتا ہے اور بھوک کی آگ میں جلتا ہے ۔ سبق مرشد پر عمل نہیں کیا بد عقلی میں عزت گنواتا ہے ۔ کوئی ہی سبق مرشد پر عمل پیرا ہوکر الہٰی گاڑی ہے جس میں ۔ پانچ بیل جتے ہوئے ہیں۔ مراد گیان اندرے یا اعضائے احساس اس کی رہنمائی کر رہے ہین۔ جتنی دیر اس میں الہٰی نور موجود رہتا ہے ۔ یہ گاری بد ستور چلتی رہتی ہے ۔ مگر جب الہٰی نور جو اس کادھرا ہے ۔ ٹوٹ جاتا ہے ۔ خدا اپنا نور کھنچ لیتا ہے ۔ تو یہ جسمانی گاری پلٹ جاتی ہے لکڑیاں بکھر جاتی ہے اور وہ اپنے ذمہداریوں کے بوجھ تلے جل جاتا ہے ۔ بو سیدہ ہو جاتا ہے ۔ مراد جسمانی اعضا باغی ہوجاتے ہین۔ اور انسانی زندگی راہ راست پر نہیں رہتی ۔ عبادت وریاضت کا دھرا ٹوٹ جاتا ہے اور اخلاقی و روحانی زندگی برائیوں بدکاریوں اور بد علموں کے بوجھ تلے دب کر انسانی زندگی تباہ ہوجاتی ہے ۔ اور انسان بیرونی دکھادوں میں ملبوس رہتا ہے (2) اے جوگی کلام مرشد کو سمجھ عذاب و آسائش کو یکساں جان عمی اور جدائی کو ایک سا سمجھ کلام یا سبق مرشد کو پنا کر الہٰی نام سچ و حقیقت دلمیں بساو۔ الہٰی نام تیرا بھنڈاراہ ہوا اور الہٰی نام کی یادو ریاض سے اعضائے احساس جسمانی ڈگمگانے سے بچین گے (3) جس یوگی نے ( من کی لرزش ) یا روحانی سکون کو جوگیوں کے کمرے کے گرد باندھنے والا رسا بنالیا اس نے دنیاوی دولت کی بندشوں سے آزادی پالی اور سبق مرشد سے شہوت اور غصہ اپنے زیر کر لیا مرشد کی صحبت و قربت میں خدا کو دلمیں بساتا ہی کانوں میں مندراںپاتا ہے ۔ اے نانک الہٰی پیار سے خادم خدا کی زندگی کامیاب ہوتی ہے ۔

ستِگُر پ٘رسادِ॥
رامکلیِ مہلا ੩ گھرُ ੧॥
ستجُگِ سچُ کہےَ سبھُ کوئیِ ॥
گھرِ گھرِ بھگتِ گُرمُکھِ ہوئیِ ॥
ستجُگِ دھرمُ پیَر ہےَ چارِ ॥
گُرمُکھِ بوُجھےَ کو بیِچارِ ॥੧॥
جُگ چارے نامِ ۄڈِیائیِہوئیِ॥
جِ نامِ لاگےَ سو مُکتِ ہوۄےَگُربِنُنامُنپاۄےَکوئیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
ت٘ریتےَاِککلکیِنیِدوُرِ॥
پاکھنّڈُ ۄرتِیاہرِجانھنِدوُرِ॥
گُرمُکھِ بوُجھےَ سوجھیِ ہوئیِ ॥
انّترِ نامُ ۄسےَسُکھُہوئیِ॥੨॥
دُیاپرِ دوُجےَ دُبِدھا ہوءِ ॥
بھرمِ بھُلانے جانھہِ دوءِ ॥
دُیاپُرِ دھرمِ دُءِ پیَر رکھاۓ॥
گُرمُکھِ ہوۄےَتنامُد٘رِڑاۓ॥੩॥
کلجُگِ دھرم کلا اِک رہاۓ॥
اِک پیَرِ چلےَ مائِیا موہُ ۄدھاۓ॥
مائِیا موہُ اتِ گُبارُ ॥
ستگُرُ بھیٹےَ نامِ اُدھارُ ॥੪॥
سبھ جُگ مہِ ساچا ایکو سوئیِ ॥
سبھ مہِ سچُ دوُجا نہیِ کوئیِ ॥
ساچیِ کیِرتِ سچُ سُکھُ ہوئیِ ॥
گُرمُکھِ نامُ ۄکھانھےَکوئیِ॥੫॥
سبھ جُگ مہِ نامُ اوُتمُ ہوئیِ ॥
گُرمُکھِ ۄِرلابوُجھےَکوئیِ॥
ہرِ نامُ دھِیاۓبھگتُجنُسوئیِ॥
نانک جُگِ جُگِ نامِ ۄڈِیائیِہوئیِ॥੬॥੧॥
لفظی معنی:
ست جگ ۔ سچے زمانے ۔ سچ ۔ اصل۔ حقیقت۔ بھگت۔ الہٰی پریمی ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ دھرم۔ انسانی فرض دھرم پیر ہے چار ۔ مراد انسانیت مکمل ہے ۔ انسان اپنے پورے فرائض سر انجام دیتا ہے ۔ وچار ۔ سمجھ ۔ بوجھے ۔ سمجھتا ہے (1) جگ چارے ۔ چار زمانے کے دوروں میں۔ نام وڈیائی ہوئی ۔ الہٰی نام نام سچ حق و حقیقت سے ہی عظمت و حشمت حاصل ہوتی ہے ۔ جو نام لاگے ۔ جو سچ و حقیقت سے پیار کرتا ہے اور اپناتا ہے ۔ مکت ہووے ۔ وہ دنیاوی الجھنوں اور برائیوں سے نجا تا پتا ہے (1) رہاؤ۔ تیریتے ۔ زمانے کے تیرے دور میں۔ انسانی فرائض۔ اک کل ۔ خاقت۔ پاکھنڈ ۔ دکھاوا۔ گورمکھ بوجھے ۔ مرشد کے وسیلے سے سمجھے (2) دوآپر ۔ دوسرے دو رمیں۔ دوبے ۔ تفرقات۔ دبدھا۔ دوچتی۔ اپنا۔ غیر کی تمیز۔ درڑاے ۔ پکا پختہ کرائے ۔ دھرم۔ کلا ۔ انسانی فرض کا چوتھا حصہ ۔ مائیا موہ ودھائے ۔ دنیاوی دولت کی محبت میں اضافہ ہوا۔ ستگر بیٹھے نام ادھار ۔ سچے مرشد کے ملاپ اور نام سچ و حقیقت جسنے کامیابی ملتی ہے (4 ) ساچا۔ صدیوی سچا۔ ایکو۔ واحد۔ کیرت۔ صفت صلاح (5) اُتم۔ بلندر تبہ ۔ وڈیائی ۔ عظمت و حشمت
ترجمہ معہ تشریح:
ہر دور زماں میں ملتی ہے الہٰی نام سچ و حقیقت سے عزت چاروں جگوں میں الہٰی نام اور سچ ہی ہے عزت کا باعث منبع یا وسیلہ ہے جو کرتا ہے ۔ نام سے محبت دیون سے نجات پاتا ہے ۔ مگر ہوئی نہیں حاصل مرشد کے بغیر (1) ست جگ۔ سچے زمانے ہر کوئی بولتا تھا سچ اور سچ کو ہی گھر میں عظمت حاصل تھی ۔ دھرم کے چار اصول ہیںیا چار منزلین ہین گر اسے کوئی مرید مرشد ہی سمجھتا ہے (1) تیر یتے دور زمان یا جگ میں ایک ان چاؤں میں کی قسمت کم ہوگئی ۔ اور لوگوں میں دکھاواے کا زور پکڑ گیا اور لوگ خدا کو دور سمجھنے لگتے مرید مرشد ہونسے ے یہ سمجھ آئی ہے ۔ کہ جب دلمیں الہٰی نام سچ و حقیقت بسے تب ہی سکھ اور آرام حاصل ہوتا ہے (2 ) دوآپر میں لوگ و تکبر او تفرقات میں گھر گئے اور گمراہ ہوکر اپنے اور دوسرے کو ہی اچھا سمجھنے لگے غرض یہ کہ فرض انسانی دو اصولوں پر ہی مشتمل رہ گیا ۔ مرید مرید مرشد ہونے پر ہی نام سچ و حقیقت پر ار بندرہ سکتا ہے (3) کلجگ ایک اصول اور کم ہوگیا اور صرف ایک رہ گیا ۔ اور انسانی دولت میں عقل ہوش روحانیت اور اخلاق کی روشنی ختم ہوگئی انسان پانچوں برائیوں میں مکمل طور پر محسور ہوگیا مگر تا ہم جسکا ملاپ مرشد سے ہوجاتاہے وہ اسے الہٰی نام سچ و حقیقت میں لگا کر اسے اس دنیاوی اندھیرے بچا لیتا ہے (4) ہر زمانے میں واحد صدیوی ہستی سچ ۔ اور سچا خدا ہے ۔ سب میں بستا ہے اس کے علاوہ ایسی کوئی دوسری ہستی نہیں سچی صفت صلاح و حمدوثناہ سے عظمت و حشمت حاصل ہوتی ہے ۔ اور ہر طرح کی آرام و آسائش حاصل ہوتی ہے ۔ مگر نام مرید مرشد ہونے سے حاصل ہوتا (5) ہر زمانے میں الہٰی نام سچ حقیقت کی یاد ریاض ہی سب سے مقدم اعلٰے اعمال ہے ۔ اسے مرید مرشد ہی سمجھتا ہے اور وہی عبادت وریاضت کرتا ہے ۔ وہی عابد ہے جسکا دھیان ہے الہٰی نام ہیں اے نانک ہر دور میں الہٰی نام سے عزت حاصل ہوتی ہے ۔

رامکلیِ مہلا ੪ گھرُ ੧
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
جے ۄڈبھاگہوۄہِۄڈبھاگیِتاہرِہرِنامُدھِیاۄےَ॥
نامُ جپت نامے سُکھُ پاۄےَہرِنامےنامِسماۄےَ॥੧॥
گُرمُکھِ بھگتِ کرہُ سد پ٘رانھیِ॥
ہِردےَ پ٘رگاسُہوۄےَلِۄلاگےَگُرمتِہرِہرِنامِسمانھیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہیِرا رتن جۄیہرمانھکبہُساگربھرپوُرُکیِیا॥
جِسُ ۄڈبھاگُہوۄےَۄڈمستکِتِنِگُرمتِکڈھِکڈھِلیِیا॥੨॥
رتنُ جۄیہرُلالُہرِناماگُرِکاڈھِتلیِدِکھلائِیا॥
بھاگہیِنھ منمُکھِ نہیِ لیِیا ت٘رِنھاولےَلاکھُچھپائِیا॥੩॥
مستکِ بھاگُ ہوۄےَدھُرِلِکھِیا تا ستگُرُ سیۄالاۓ॥
نانک رتن جۄیہرپاۄےَدھنُدھنُگُرمتِہرِپاۓ॥੪॥੧॥
لفظی معنی:
وڈبھاگ ۔ بلندقسمت ۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت سے ۔ ہر نام دھیاوے ۔ الہٰی نام دھیاویہہ ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت میں دھیان لگتا ہے ۔ نام جپت ۔ سچ و حقیقت کی یادوریاض سے ۔ نام سماوے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت میں محو ومجذوب رہتا ہے (1) گورمکھ ۔ مرشد کے وسیلے سے ۔ بھگت ۔ عبادت وریاضت ۔ سد ۔ ہمیشہ ۔ پرانی ۔ اے انان ۔ ہروے پر گاس۔ د ل روشن ۔ گرمت۔ سبق مرشد۔ سمانی ۔ محو (1) رہاؤ ۔ ساگر۔ سمندر۔ بھر پور ۔ مکمل ۔ مستک ۔ پیشانی ۔ گرمت۔ سیتی مرشد (2) تلی ۔ ہتھیلی ہاتھ کی ۔ بھاگ۔ ہین ۔ بد قسمت ۔ منمکھ ۔ مرید من ۔ خودی پسند۔ ترن۔ وہلے ۔ تنکے کے پیچھے ۔ لاکھ ۔ نکھ (3) دھر۔ الہٰی حضور ۔ بارگاہ الہٰی ۔ ستگر سیوالائے ۔ تو سچا مرشد خدمت خدا میںلگاتا ہے ۔ دھن دھن گرمت ہرپائے ۔ قابل ستائش ہے سیتی مرشد میں سے الہٰی ملاپ ہوتاہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہمیشہ الہٰی عبادت وریاضت کرؤ معرفت مرید مرشد اے انسان اس سے ذہن روشن ہوتا ہے ۔ خدا سے محبت پیدا ہوتی ہے ۔ اور سبق مرشد سے الہٰی نام سچ و حقیقت میں دھیان لگتا ہے (1) رہاؤ۔ اگر بلند ہو قسمت تو بلند قسمت سے الہٰی نام سچ و حقیقت میں دھیان لگتا ہے ۔ سچ و حقیقت جو الہٰینام ہے اس کی یادو ریاض سے سکھ ملتاہے الہٰی نا م سے ہی الہٰی نام سچ و حقیقت دل میں بستا ہے (1) خدا نے ہیرے جواہرات موتیوں سے سمندر بھر رکھے ہیں۔ جس کی ہے بلند قسمت اور وہ سبق مرشد پر عمل پیرا ہوکر ان کو نکال لیتا ہے (2) الہٰی نام سچ و حقیقت رتن ۔ ہیرے جواہرات کی مانند ہی قیمتی ہے مرشد اسے نکال کر ہاتھ کی ہتھیلی پر نکال کر دکھلا دیتا ہے ۔ بد قسمت خودی پسند نہیں لے سکتا جو ایک تنکے کے پیچھے چھپا ہوا ہے لاکھوں (3 ) اگر بارگاہ الہٰی اسے اس کی پشانی پر تحریر ہو سچا مرشد تو اس کی خدمت میں لگاتا ہے ۔ اے نانک۔ مبارک ہے ۔ اس سبق مرشد کو جو خدا سے ان قیمتی رتن جواہرات جیسے قیمتی اوصاف پاتاہے ۔

رامکلیِ مہلا ੪॥
رام جنا مِلِ بھئِیا اننّدا ہرِ نیِکیِ کتھا سُناءِ ॥
دُرمتِ میَلُ گئیِ سبھ نیِکلِ ستسنّگتِ مِلِ بُدھِ پاءِ ॥੧॥
رام جن گُرمتِ رامُ بولاءِ ॥
جو جو سُنھےَ کہےَ سو مُکتا رام جپت سوہاءِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جے ۄڈبھاگہوۄہِمُکھِمستکِہرِرامجنابھیٹاءِ॥
درسنُ سنّت دیہُ کرِ کِرپا سبھُ دالدُ دُکھُ لہِ جاءِ ॥੨॥
ہرِ کے لوگ رام جن نیِکے بھاگہیِنھ ن سُکھاءِ ॥
جِءُ جِءُ رام کہہِ جن اوُچے نر نِنّدک ڈنّسُ لگاءِ ॥੩॥
دھ٘رِگُدھ٘رِگُنرنِنّدکجِنجننہیِبھاۓہرِکےسکھاسکھاءِ॥
سے ہرِ کے چور ۄیمُکھمُکھکالےجِنگُر کیِ پیَج ن بھاءِ ॥੪॥
دئِیا دئِیا کرِ راکھہُ ہرِ جیِءُ ہم دیِن تیریِ سرنھاءِ ॥
ہم بارِک تُم پِتا پ٘ربھمیرےجننانکبکھسِمِلاءِ॥੫॥੨॥
لفظی معنی:
رام جنا۔ خادمان خدا ۔ انند۔ سکون۔ نیکی ۔ اچھی ۔ درمت ۔ بد عقلی ۔ بری سمجھ ۔ میل۔ ناپاکیزگی ۔ نیکل۔ نکل گئی ۔ ست سنگت ۔ نیک سچے آدمیوں کی صحبت وقر بت ۔ بدھ ۔ عقل سمجھ (1 ) گرمت۔ سبق مرشد۔ ۔ رام بولائے ۔ خدا کی یاد دلاتے ہیں۔ سہائے ۔ شہرت پاتا ہے (1) رہاؤ۔ مکھ مستک ۔ قسمت میں۔ رام جنا بھیٹائے ۔ تو کدمتگاران خدا سے ملاپ ہوتا ہے ۔ والد۔ غریبی ۔ دکھ ۔عذاب (2) نیکے ۔ نیک ۔ سکھائے ۔ اچھے نہیں لگتے ۔ ڈنس۔ ڈنگ ۔ دھرگ۔ لعنت۔ سکھا۔ ساتھی ۔ بیمکھ ۔منکر۔ منافق ۔ پیج ۔ عزت (4) دین ۔ غریب۔ ناتواں۔ بارک ۔ بچے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خادمان خدا سبق مرشد سے ریاض الہٰی کراؤ۔ اس سے جو کہتا ہے اور جو سنتا ہے ۔ وہ بد عقلی سے نجات پاتا ہے ۔ اور الہٰی یاد وریاض سے اس کی زندگی اچھی ہو جاتی ہے (1) رہاؤ ۔ الہٰی خدمتگار وں کے ملاپ سے سکون ملتا ہے ۔ الہٰی حمدوثناہ سننے سے بد عقلی کی ناپاکیزگی دور ہوجاتی ہے ۔ خدا رسیدہ پاکدامنوں کی صحبت و قربت سے عقل و شعو ر حاصل ہوتا ہے (1) اگر قسمت ہو بلند تو خادمان خدا کا ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔ روحانی رہبر سنتوں کا دیار بخشش خدا تاکہ مالی غریبی وناداری اور عذاب مٹ جائے (2) خادمان خدا نیک زندگی بسر کرنے والے بد قسمتوں کو اچھے نہیں لگتے ۔ جیسے جیسے بلند آواز میں خدا خدا کہتے ہیں انہیں بلندی و برتی حاصل ہوتی ہے مگر بدگوئی کرنے والے اس سے تکلیف محسوس کرتے ہیں (3) لعنت ہے ان برا چاہنے چالواں الہٰی ساتھی خادمان خدا اچھے نہیںلگتے ۔ وہ الہٰیچور ہیں مرشد سے بیرونی رکھتے ہیں اور انہیں عزت مر شد اچھی نہیں لگتی انکے رخ سیاہ ہوجائے ہیں (4) اے خدام کرم و عنایت فرماؤ ہم غریبوں نے تیر پناہ لی ہے ۔ اے خدا ہم تیرے بچے ہین توہمار پتا ہے ۔ اپنے خادم نانک کو اپنی بخشش سے اپنا ملاپ بخشش کر ۔

رامکلیِ مہلا ੪॥
ہرِ کے سکھا سادھ جن نیِکے تِن اوُپرِ ہاتھُ ۄتاۄےَ॥
گُرمُکھِ سادھ سیئیِ پ٘ربھبھاۓکرِکِرپاآپِمِلاۄےَ॥੧॥
رام مو کءُ ہرِ جن میلِ منِ بھاۄےَ॥
امِءُ امِءُ ہرِ رسُ ہےَ میِٹھا مِلِ سنّت جنا مُکھِ پاۄےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہرِ کے لوگ رام جن اوُتم مِلِ اوُتم پدۄیِپاۄےَ॥
ہم ہوۄتچیریِداسداسنکیِمیراٹھاکُرُکھُسیِکراۄےَ॥੨॥
سیۄکجنسیۄہِسےۄڈبھاگیِرِدمنِتنِپ٘ریِتِلگاۄےَ ॥
بِنُ پ٘ریِتیِکرہِبہُباتاکوُڑُبولِکوُڑوپھلُپاۄےَ॥੩॥
مو کءُ دھارِ ک٘رِپاجگجیِۄنداتےہرِسنّتپگیِلےپاۄےَ॥
ہءُ کاٹءُ کاٹِ باڈھِ سِرُ راکھءُ جِتُ نانک سنّتُ چڑِ آۄےَ॥੪॥੩॥
لفظی معنی:
سکھا۔ ساتھی ۔ سادتھ ۔ پاکدامن ۔ نیکے ۔ نیک۔ اچھے ۔ وتاوے ۔ بطور بخشش امدادی ہاتھ رکھنا۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد ۔ سادھ ۔ بطور بخشش امدادی ہاتھ رکھنا ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد سادھ ۔ جنہوں نے زندگی کے (ساتھ ) سفر کو صراط مستقیم بنا کر اس پر عمل پیرا ہے ۔ سیئی ۔ دہی ۔ پربھ بھائے ۔ خدا کو پیارا (1) ہرجن ۔ خادمن خدا ۔ من بھاوئے ۔ دل چاہتا ہے ۔ امیو ۔ انمرت۔ آب حیات (1) رہاؤ۔ اُتم۔ اونچا۔ پدوی ۔ درجہ ۔ چیری ۔ چیلی ۔ شاگرد۔ ٹھاکر۔ مالک ۔ آقا (2) وڈبھاگی ۔ بلند قسمت ۔ رو۔ دل ۔ پریت۔ پیار کوڑ۔ جھوٹ۔ کوڑ وپھل جھوٹے نتیجے (3) جگجیون داتے ۔ عالم کو زندگی بخشنے والے ۔ پگی ۔ پاؤں۔ باڈھ ۔ کات کر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا میرے دلمیں خواہش ہے میرا ملاپ خادمان خدا سے کراؤ۔ الہٰی لطف پیار۔ ایک آب حیات ہے میٹھا ہے روحآنی رہبر سے ملکر منہ میں پڑتا ہے (1)رہاؤ۔ خدا کے ساتھی جنہوں نے طرز زندگی راہ راست پر ڈال رکھی ہے ۔ کدا ان پر اپنا امدادی ہاتھ رکھتا ہے ۔ وہی مریدان مرشد اور پاکدامن خادمان خدا خدا کے پیارے ہیں۔ جن پر مہربانی کر خود ملاتا ہے (1) خدا کے پیارے اور خدا سے پیار کرنے والے بلند روحانی رتبہ پاتے ہیں۔ میں ان کے غلاموں کے کا غلام ہوں۔ مجھ پر الہٰی نظر عنایت و شفقت ہے (2) جو خادمان خدا خدا کی خدمت کرتے ہیں وہ بلند قسمت ہیں۔ خدا ان کے دل میں پریم پیار پیدا کرتا ہے ۔ جو بغیر پریم پیار باتیں بناتا ہے ۔ ایسا آدمی جھوٹ بولتا ہے ۔ جاکا نتیجہ بھی جھوٹ ہی ہوتا ہے (3) اے سارے عالم کو زندگی بخشنے والے خدا مجھ پر کرم و عنایت فرما اور مجھے روحانی رہبر ( سنتوں ) کا پیروکار بنا۔ اے نانک۔ سنتہوں کے راستے میں اپنا سر نچھادر کردوں۔

رامکلیِ مہلا ੪॥
جے ۄڈبھاگہوۄہِۄڈمیرےجنمِلدِیاڈھِلنلائیِئےَ॥
ہرِ جن انّم٘رِتکُنّٹسرنیِکےۄڈبھاگیِتِتُناۄائیِئےَ॥੧॥
رام مو کءُ ہرِ جن کارےَ لائیِئےَ ॥
ہءُ پانھیِ پکھا پیِسءُ سنّت آگےَ پگ ملِ ملِ دھوُرِ مُکھِ لائیِئےَ ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہرِ جن ۄڈےۄڈےۄڈاوُچےجوستگُرمیلِمِلائیِئےَ ॥
ستگُر جیۄڈُاۄرُنکوئیِمِلِستگُرپُرکھدھِیائیِئےَ॥੨॥
ستگُر سرنھِ پرے تِن پائِیا میرے ٹھاکُر لاج رکھائیِئےَ ॥
اِکِ اپنھےَ سُیاءِ آءِ بہہِ گُر آگےَ جِءُ بگُل سمادھِ لگائیِئےَ ॥੩॥
بگُلا کاگ نیِچ کیِ سنّگتِ جاءِ کرنّگ بِکھوُ مُکھِ لائیِئےَ ॥
نانک میلِ میلِ پ٘ربھسنّگتِمِلِسنّگتِہنّسُکرائیِئےَ॥੪॥੪॥
لفظی معنی:
جن ملدیا۔ خادم خدا کے ملاپ ۔ انمرت کنٹ ۔ آب حیات کا۔ تالاب۔ نیکے ۔ اچھے ۔ نادایئے ۔ اشنان یاغسل ۔ تت۔ اس میں (1) ہر جن کارے ۔ الہٰی خدمتگار کی خدمت میں ۔ پگ ۔ پاؤں (1) رہاؤ۔ ستگر۔ سچا مرشد ۔ پرکھ دھیایئے ۔ خدا میں دھیان لگائیں (2) ٹھاکر ۔ مالک۔ لاج ۔ عزت۔ سوائے ۔ غرض ۔ مطلب۔ بگل۔ بگلہ ۔ سمادھ ۔ دھیان (3) بنچ۔ کینہ ۔ سنگت۔ صحبت ۔ ساتھ ۔ ہنس۔ نیک۔ پاک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا مجھے اپنے خدمتگاروں کی خدمت عنایت کر میں پانی لاؤں پنکھا ہلاؤں آتا پیسوں او ر سنت کے پاؤں رہو وں اور اس کے پاؤں کی دہول چہرے پر لگاؤ لگا (1 ) رہاؤ۔ اگر میں بلند قسمت ہوجاوں تو الہٰی خادم کو ملنے میں کاہل نہیں کرنی چاہیے ۔ خادم خدا آب حیات کا چشمہ اور تالاب ہے ۔ بلند قسمت سے اسمیں غسل حاصل ہوتا ہے (1) الہٰی خدمتگار بلند اخلاق بلند زندگی گزارنے والے ہوتے ہیں۔ جن کا ملاپ سچا مرشد کراتا ہے ۔ سچے مرشد جتنی بلند ہستی کوئی دوسری نہیں۔ ا کے ملاپ سے ہی خدا میں دھیان اور توجو دی جا سکتی ہے (2) جو سچے مرشد کا سایہ قبول کرتے ہین۔ خدا ان کی عزت کا محافظ بنتا ہے ۔ ایک اپنے غرض کی خاطر مرشد کے پاس بیٹھتے ہیں۔ اس طرح سے جیسے بگلہ اپنا دھیان لگاتا ہے (3) بگلہ کو اور برے آدمی کی صحبت کرنے سے مراد مردانہ دار اور گندگی میں منہ لگانا ہے ۔ اے نانک۔ خدا کے در پر عرض گذار کہ ایسی صحبت و قربت عنایت کر جس کی صحبت سے ہنس کی مانند زندگی ہوجاتے ہیں۔

رامکلیِ مہلا ੪॥
ستگُر دئِیا کرہُ ہرِ میلہُ میرے پ٘ریِتمپ٘رانھہرِرائِیا॥
ہم چیریِ ہوءِ لگہ گُر چرنھیِ جِنِ ہرِ پ٘ربھمارگُپنّتھُدِکھائِیا॥੧॥
رام مےَ ہرِ ہرِ نامُ منِ بھائِیا ॥
مےَ ہرِ بِنُ اۄرُنکوئیِبیلیِمیرا پِتا ماتا ہرِ سکھائِیا ॥੧॥ رہاءُ ॥
میرے اِکُ کھِنُ پ٘راننرہہِبِنُپ٘ریِتمبِنُدیکھےمرہِمیریِمائِیا॥
دھنُ دھنُ ۄڈبھاگگُرسرنھیِآۓہرِگُرمِلِدرسنُپائِیا॥੨॥
مےَ اۄرُنکوئیِسوُجھےَبوُجھےَمنِ ہرِ جپُ جپءُ جپائِیا ॥
نامہیِنھ پھِرہِ سے نکٹے تِن گھسِ گھسِ نک ۄڈھائِیا॥੩॥
مو کءُ جگجیِۄنجیِۄالِلےَسُیامیِرِدانّترِنامُۄسائِیا॥
نانک گُروُ گُروُ ہےَ پوُرا مِلِ ستِگُر نامُ دھِیائِیا ॥੪॥੫॥

لفظی معنی:
دیا۔ مہربانی ۔ پریتم۔ پیار۔ پران۔ زندگی ۔ چیری ۔ مرید۔ گر چنی ۔ پائے مرشد۔ مارگ ۔پنتھ ۔ زندگی گذارنے کا راستہ ۔ یا الہٰی ملاپ کا راستہ (1) ہر نام الہٰی نام سچ و حقیقت۔ من۔ بھائیا۔ دل کا پارا۔ بیلی ۔ دوست۔ سکھائیا ۔ ساتھی (1) رہاؤ۔ کھن۔ تھوڑے سے وقفے کے لئے ۔ پران۔ زندگی ۔ سانس۔ درسن۔ دیدار (1) اور ۔ دوسرا۔ سوجھے بوجھے ۔ سمجھے ۔جیو ۔ ریاج دیاد۔ نا م ہین ۔ الہٰی نام سے خالی ۔ سچ و حقیقت کے بغیر ۔ منکر ۔ منافق۔ سے نکٹے ۔ بے عزت۔ بے غیرت (3) جیوال کے ۔ اخلاق و روحانی زندگی عنایت کر ۔ روانتر۔ دلمیں۔ نام بسائیا ۔ سچ و حقیقت بسائی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا الہٰی نام سے میری دلی محبت ہے ۔ خدا کے بغیر میرا کوئی دوست نہیں میرا مان باپ اور ساتھی خدا ہے (1) رہاؤ۔ اے سچے مرشد کر م و عنایت فرماؤ خدا سے ملاو میں مرید ہوکر مرشد کے پاؤں ہڑونگا جس نے مجھے الہٰیملاپ اور زندی گذارنے کا صحیح طریقہ بتائیا ہے (1) پیارے کے بغیر اے مان میں تھوڑی دیر کے لئے دیار کے بغیر میری موت ہے ۔ وہ انسان قابل ستائش اور مبارکباد کے مستحق ہیں جو مرشد کی پناہ لے ۔ لیتے ہیں اور مرشد کے ملاپ سے دیدار اکلی پاتے ہیں (2) مجھے دوسرا کچھ سمجھ نہیں آتی مین دلمیں خدا کی یاد وریاض کرتا ہوں۔ الہٰی نام سچ وحقیقت کے بغیر نہ کچھ سوجھتا ہے نہ سمجھ آتی ہے ۔ سچ و حقیقت الہٰی نام کے بغیر بے حیائی میں زندگی بسر کرتے ہین اور بار بار بے حیائی میں بے عزتی کرواتے ہیں اور ذلیل و خوار ہوتے ہیں (3) اے عالم کی جند جان خدا میرے دلمیں اپنا نام سچ و حقیقت بسا۔ اے نانک۔ مرشد کامل مرشد ہے مرشد کے ملاپ سے ہی الہٰی نام سچ و حقیقت پر عمل پیرا ہو سکتے ہیں۔

رامکلیِمہلا੪॥
ستگُرُداتاۄڈاۄڈپُرکھُہےَجِتُمِلِئےَہرِاُردھارے॥
جیِءدانُگُرِپوُرےَدیِیاہرِانّم٘رِتنامُسمارے॥੧॥
رامگُرِہرِہرِنامُکنّٹھِدھارے॥
گُرمُکھِکتھاسُنھیِمنِبھائیِدھنُدھنُۄڈبھاگہمارے॥੧॥رہاءُ॥
کوٹِکوٹِتیتیِسدھِیاۄہِتاکاانّتُنپاۄہِپارے॥
ہِردےَکامکامنیِماگہِرِدھِماگہِہاتھُپسارے॥੨॥
ہرِجسُجپِجپُۄڈاۄڈیراگُرمُکھِرکھءُاُرِدھارے॥
جےۄڈبھاگہوۄہِتاجپیِئےَہرِبھئُجلُپارِاُتارے॥੩॥
ہرِجننِکٹِنِکٹِہرِجنہےَہرِراکھےَکنّٹھِجندھارے॥
نانکپِتاماتاہےَہرِپ٘ربھُہمبارِکہرِپ٘رتِپارے॥੪॥੬॥੧੮॥
لفظی معنی:
ستگر داتا ۔ سچا مرشد سخی ہے ۔ ہر اردھارے ۔ خدا دلمیں بستا ہے ۔ جیئہ دان ۔ روحانی زندگی کی خیرات۔ انمرت نام سہارے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت جو آب حیات ہے ۔ دلمیں بسائے ۔ سمہارے سنبھالتا ہے (1 ) کنٹھ ۔ گلے ۔ دھارے ۔ بساتا ہے ۔ گورمکھ ۔ مرشد کے ذریعے ۔ من بھائی ۔د ل کو پیاری لگی (1) رہاؤ۔ کوٹ تیتیس ۔ تیتس کروڑ۔ دھیاوے ۔ دھیان لگاتے ہیں۔ انت ۔ آخر۔ پاوے پارا۔ کامیابی پائی۔ ہروے کام۔ دلمیں شہوت ہے ۔ کامنی مانگے ۔ عورت چاہتا ہے ۔ ردماگیہہ ہاتھ پسار ۔ دوتل اور نعمتیں ہاتھ پھیلا کر مانگتا ہے (2) ہر جس ۔ الہٰی صفت صلاح۔ اردھارے ۔ دلمیں بسا کر ب۔ بھوجل۔ خوفناک سمندر (3) نکٹ ۔ نزدیک ۔ کنٹھ ۔ گلے ۔ بارک۔ بچے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خد ا میں نہایت بلند اور خوش قسمت ہوں مرشد کے وسیلے سے تیرا نام میرے گلے ہار بن گیا ہے اور مرشد سے تیری صفت صلاح سنی ہے ۔ وہ میرے دل کو بھاہ گئی ہے (1) رہاؤ۔ سچا مرشد سخی اور بلند ہستی ہے جس کے ملاپ سے خدا دل میں بستا ہے ۔ اس کامل مرشد نے روحانی زندگی کی نعمت عطا کی ہے ۔ وہ اسے اپنے دل و ذہن میں سنبھال کر رکھتا ہے (1) یوں تو تیتیس کروڑ اس کی بندگی کرتے ہیں مگر اس کے اوصاف اور قسمت کا شمار اور کنارہ نہیں پاسکے اور شہوت کی خواہش سے عورت مانگتے ہیں۔ ہاتھ پھیلا کر زر دولت کی خواہش کرتے ہیں (2) اے انسان الہٰی یادوریاض ہی یا کر الہٰی نام سچ و حقیقت سب سے بلند نیک کام ہے ۔ بلند قسمت ہی الہٰی نام کی یادوریاض کر سکتا ہے ۔ اور اس سے دنیاوی زندگی طوفانوں اور مدو جزر بھرے خوفناک سمندر کو پار کیا جا سکتا ہے (3) خدائی خدمتگاروں کو الہٰی قربت حاصل ہوتی ہے ۔ اور خدا اپنے خدمتگاروں کے ساتھ بستا ہے اور خد ا اپنے خدمتگاروں کو گلے سے لگا کر رکھتا ہے اے نانک ۔ خدا ہی ہمارا ماں باپ ہے ہمیں اپنے بچوں کی خود ہی پرورش کرتا ہے ۔

راگُرامکلیِمہلا੫گھرُ੧
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
کِرپاکرہُدیِنکےداتےمیراگُنھُاۄگنھُنبیِچارہُکوئیِ॥
ماٹیِکاکِیادھوپےَسُیامیِمانھسکیِگتِایہیِ॥੧॥
میرےمنستِگُرُسیۄِسُکھُہوئیِ॥
جواِچھہُسوئیِپھلُپاۄہُپھِرِدوُکھُنۄِیاپےَکوئیِ॥੧॥رہاءُ॥
کاچےبھاڈےساجِنِۄاجےانّترِجوتِسمائیِ॥
جیَسالِکھتُلِکھِیادھُرِکرتےَہمتیَسیِکِرتِکمائیِ॥੨॥
منُتنُتھاپِکیِیاسبھُاپناایہوآۄنھجانھا॥
جِنِدیِیاسوچِتِنآۄےَموہِانّدھُلپٹانھا॥੩॥
جِنِکیِیاسوئیِپ٘ربھُجانھےَہرِکامہلُاپارا॥
بھگتِکریِہرِکےگُنھگاۄانانکداسُتُمارا॥੪॥੧॥
لفظی معنی::
دین ۔ غریب ۔ نادار۔ بے وقار۔ گن اوگن۔ نیکی بدی ۔ ماٹی ۔ مٹی ۔ دہوپے ۔ دہونا۔ صاف کرنا۔ مانس کی گت الہٰی۔ انسان کی یہی حالت ہے (1) ستگر سیو۔ سچے مرشد کی خدمت۔ جو اچھے ۔ جیسی خواہش۔ سوئی ۔ وہی ۔ پھل۔ نتیجہ ۔ پاویہہ۔ پاتا ہے ۔ دیاپے ۔ زور کرتا ہے (1) رہاؤ۔ کاپے بھانڈے ۔کچے برتن۔ ساچ ۔ ساز۔ بناکے ۔ نوازے ۔ عزت افزائی کی ۔ انتر ۔ دلمیں۔ جوت۔ نور ۔ سمائی ۔ بسائی۔ سنبھالی ۔ لکھت ۔ تحریر ۔ دھر ۔ کرتے ۔ الہٰی درگاہ سے کرتار نے ۔ کرت کمائی ۔ اعمال کئے (2) من تن۔ دل و جان۔ تھاپ ۔ سمجھ ۔ آون جانا۔ تناسخ۔ آواگون ۔ چت۔ دلمیں۔ موہ اندھ لپٹانا۔ اندھیری محبت میں ملوث (3) محل۔ ٹھکانہ ۔ اپار ا ۔ اعداد و شمار سے بعید ۔ جن کیا۔ جس نے پیدا کیا ہے بنائیا ہے ۔ سوئی پربھ جانے ۔ وہی خدا جانتا ہے ۔ ہر کے گن گاوا۔ الہٰی حمدوثناہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل سچے مرشد کی خدمت سے سکھ ملتا ہے ۔ جو چاہو گے پاو گے کوئی عذاب نہ آئیگا (1) رہاو۔ اے غریب نواز کرم و عنایت فرماؤ میری نیکی بدی کا خیال نہ کرؤ انسان اس مٹی کی مانند ہے جس کے دہو نے سے اس کی پلیدی یا ناپاکیزگی صاف نہیں ہو سکتی یہی حالت انسان کی بھی ہے (1)
کچے برتن بنا کر ان پر نوازش کی مراد انسان کے ناپائیدار جسم پیدا کرکے انہیں عظمت بخشی اور ان میں اپنا نور بسائیا جیسا خدا نے کسی کے بارے تحریر کیا ہے ۔ ان کے اعمال نامے میں انسان ویسا ہی کام کرتا ہے (2) انسان اپنے جسم اور من کو اپنا خیال نہیں اپنے جسم اور زندگی کی محبت میں گرفتار (3) جس خدا نے یہ عالم پیدا کیا ہے وہی جانتا ہے خدا کا ٹھکانہ نہایت وسیع اور اعداد و شمار سے بعید اور انسانی رسائی سے باہر ہے ۔ اے نانک۔ تمہارے خدمتگار خدا کی عبادت وریاضت کرتاہے اور اسی کی حمدوثناہ ۔

رامکلیِمہلا੫॥
پۄہُچرنھاتلِاوُپرِآۄہُایَسیِسیۄکماۄہُ॥
آپستےاوُپرِسبھجانھہُتءُدرگہسُکھُپاۄہُ॥੧॥
سنّتہُایَسیِکتھہُکہانھیِ॥
سُرپۄِت٘رنردیۄپۄِت٘راکھِنُبولہُگُرمُکھِبانھیِ॥੧॥رہاءُ॥
پرپنّچُچھوڈِسہجگھرِبیَسہُجھوُٹھاکہہُنکوئیِ॥
ستِگُرمِلہُنۄےَنِدھِپاۄہُاِنبِدھِتتُبِلوئیِ॥੨॥
بھرمُچُکاۄہُگُرمُکھِلِۄلاۄہُآتمُچیِنہُبھائیِ॥
نِکٹِکرِجانھہُسداپ٘ربھُہاجرُکِسُسِءُکرہُبُرائیِ॥੩॥
ستِگُرِمِلِئےَمارگُمُکتاسہجےمِلےسُیامیِ॥
دھنُدھنُسےجنجِنیِکلِمہِہرِپائِیاجننانکسدکُربانیِ॥੪॥੨॥
لفظی معنی:
پوہوچر ناتل۔ پاوں کے سچے پو۔ اوپر آدہو ۔ تو اوپر آو گے ۔ ایسی سیو۔ ایسی خدمت۔ اوپر۔ اونچا۔ درگیہہ ۔ الہٰی دربار میں (1) کتھہو ۔ بیان کر ہو ۔ سد۔ فرشتے ۔ نر ۔ا نسان۔ دیو ۔ دیوتے ۔ گورمکھ بانی ۔ مرشد کے ذریعے کلام (1) رہاؤ ۔ پرینچ ۔ دہوکا فریب۔ سہج گھر بیہو ۔ روحانی سکون میں رہو ۔ نوے ندھ ۔ نو خزانے ۔ ان بدھ ۔ اس طریقے سے ۔ تت ۔ اصلیت ۔ بلوئی ۔ نکالو (2) بھر م چکا دہو ۔ وہم وگمان مٹاؤ۔ آتم چینہو ۔ اپنے آپ کی شناکت پہچان کرؤ۔ نکٹ۔ نزدیک۔ برائی ۔ برا سلوک (3) مارگ مکتا۔ کھلا راستہ ۔ سہجے ۔ آسانی سے ۔ کل ۔ کل پگ۔ ہر پائیا۔ خدا نصیب ہوا۔ صد قربانی ۔ سو بار قربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
ا ے روحانی رہبر سنتہو ایسی الہٰی کہانی کہو جس سے فرشتے دیوتے اور انسان سارے پاک زندگی والے ہوجاتے ہیں۔ مرشد کی وساطت سے ایسا کلام کہو (1) رہاؤ ۔ پاؤں تلے پو ۔ اور اونچے اخلاق والے ہوجاو گے ۔ اسطرح سے خدمت کرؤ جس سے بارگاہ الہٰی میں روحانی سکون و خوش پاؤ گے (1) دہوکا فریب چھوڑ رک روحانی سکون میں رہو اس طرح سے کسی کو چھوٹا نہ کہو سچے مرشد سے میلو اسطرح سے اصلیت و حقیقت کا پتہ کرؤ اور نو خزانے پاو (2) وہم وگمان مٹاؤ مرید مرشد سے پیار کرؤ اور اپنے آپ خوئش کردار کی تحقیق اور پہچان کرؤ۔ خدا کو حاضر ناظر اور ساتھ سمجھو اس سے کسی سے برا سلوک نہیں کرؤ گے (3) سچے مرشد سے ملاپ ہوجائے تو زندگی راہیں۔ آسان ہوجاتی ہے ۔ اور روحانی سکون میں الہٰی ملاپ حاصل ہوجاتا ہے ۔ قابل ۔ ستائش وہ انسان جن کا اس کل بگ کے دور میں ملاپ نصیب ہوا اے خادم نانک ہمیشہ قربان ہوں ان پر ۔

رامکلیِمہلا੫॥
آۄتہرکھ’ن’جاۄتدوُکھانہبِیاپےَمنروگنیِ॥
سدااننّدُگُرُپوُراپائِیاتءُاُتریِسگلبِئوگنیِ॥੧॥
اِہبِدھِہےَمنُجوگنیِ॥
موہُسوگُروگُلوگُنبِیاپےَتہہرِہرِہرِرسبھوگنیِ॥੧॥رہاءُ॥
سُرگپۄِت٘رامِرتپۄِت٘راپئِیالپۄِت٘رالوگنیِ॥
آگِیاکاریِسداسُکھُبھُنّچےَجتکتپیکھءُہرِگُنیِ॥੨॥
نہسِۄسکتیِجلُنہیِپۄناتہاکارُنہیِمیدنیِ॥
ستِگُرجوگکاتہانِۄاساجہاۄِگتناتھُاگمدھنیِ॥੩॥
تنُمنُہرِکادھنُسبھُہرِکاہرِکےگُنھہءُکِیاگنیِ॥
کہُنانکہمتُمگُرِکھوئیِہےَانّبھےَانّبھُمِلوگنیِ॥੪॥੩॥
لفظی معنی:
آوت ہرکھ ۔ آئے کی خوشی۔ من روگنی ۔ دل کو بیماری ۔ بیوگنی ۔ جدائی کا درد (1) جوگنی ۔ الہٰی ملاپ ۔ لوگ۔ دنیاوی شرم۔ (1) رہاؤ۔ میرت۔ مات لوک۔ یہ عالم ۔ الوگنی ۔ مالک اوصاف۔ اگیا کایر۔ فرمانبرداری ۔ سکھ بھنچے ۔ سکھ پاتا ہے ۔ جت کت ۔ جدھر ۔ کدھر (2) یسیوکستی ۔ الہٰی کرامات ۔ جاندار ۔بیجان ۔ مید نی ۔ عالم ۔ جوگ۔ ملاپ ۔ نواسا ۔ رہائش۔ اوگت۔ ابناسی ۔ لافناہ ۔ اگم دھنی ۔ انسانی رسائی سے بلند مالک (3) گنی ۔ شمار کروں۔ ہم تم ۔ میں اور تو۔ انبھے انبھ ۔ پانی میں پانی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس من یا دل کا اسطرح سے ملاپ ہوتاہے ۔ کہ اسے محبت غمی بیماری دنیاوی شرم حیا کا کوئی تاثر نہیں پڑت ا ۔ اس صورت میں الہٰی ملاپ کا رس اور لطف حاصل ہوتا ہے ۔ (1) رہاؤ۔ نہ آتے کی خوش ہے ہ جاتے کی غمی نہ دلمیں ملال ۔ کامل مرشد کاملاپ حاصل ہوا تو جدائی ختم ہوئی (1) بہشت پاک یہ علام بھی پاک اور پاتال بھی پاک ہے دنیاوی حیا و شرم کا کوئی اثر نہیں۔ ہمیشہ پر سکون خوشی ہے اب جدھر نظر جاتی ہے ۔ خدا دیکھتا ہوں نور خدا دیکھتا ہوں (2) اب نہ مالی نہ کراماتی نہ زیارت گاہوں کی زیارت نہ جسمانی کسرت نہ زمینی نعمتیں کسی کا کوئی تاثر نہین۔ اب میرے سچے مرشد اور الہٰی ملاپ کا ہمیشہ کے لئے ٹھکانہ ہوگیا ہے (3) یہ دل و جان دولت سارے خدا کی ملکیت ہیں الہٰی اوصاف کیسے شمار کر سکتا ہوں ۔ اے نانک۔ بتادے کہ اب میری اور تیری ختم کر ادی مرشد نے جیسے پانی میں مل جاتا ہے پہچان ختم ہوجاتی ہے ایسے ہی انسان کی اور خدا کی یکسوئی ۔ خدا انسان اور انسان خدا ہو جاتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
ت٘رےَگُنھرہترہےَنِراریِسادھِکسِدھنجانےَ॥
رتنکوٹھڑیِانّم٘رِتسنّپوُرنستِگُرکےَکھجانےَ॥੧॥
اچرجُکِچھُکہنھُنجائیِ॥
بستُاگوچربھائیِ॥੧॥رہاءُ॥
مولُناہیِکچھُکرنھےَجوگاکِیاکوکہےَسُنھاۄےَ॥
کتھنکہنھکءُسوجھیِناہیِجوپیکھےَتِسُبنھِآۄےَ॥੨॥
سوئیِجانھےَکرنھیَہاراکیِتاکِیابیچارا॥
آپنھیِگتِمِتِآپےجانھےَہرِآپےپوُربھنّڈارا॥੩॥
ایَسارسُانّم٘رِتُمنِچاکھِیات٘رِپتِرہےآگھائیِ॥
کہُنانکمیریِآساپوُریِستِگُرکیِسرنھائیِ॥੪॥੪॥
لفظی معنی:
ترے گن ۔ دنیاوی مائیا کے تین اوصاف ۔ راج یا ترقی کی خواہش طاقت کی خواہش۔ لالچ۔ نراری ۔ نر لیپ ۔ بیلاگ۔ بلاتاثر ۔ سادھک ۔ زندگی کے صراط مستقیم کے متلاشی اور جہد کر نے والے ۔ سادھ۔ جنہوں نے صراط مسقتیم پاکر عمل پیرا ہوگئے ۔ رتن کو ٹھڑی قیمتی نعمتوں سے مراد قیمتی الہٰی اوصاف۔ انمرت ۔ آب حیات جس سے زندگی روحانی وا خلاقی ہوجاتی ہے ۔ سنپورن ۔ مکمل (1) اچرج ۔ حیران کرنے والی ۔ ششدر۔ دست۔ چیز۔ اشیا۔ اگوچر۔ جو بیان نہ ہو سکے ۔ (1)رہاؤ۔ جوگا۔ لائق ۔ قابل ۔ با توفیق ۔ سوجھی ۔ سمجھ ۔ پیکھے ۔ دیکھتا ۔ تِسُ بن روے ۔ اسکا پیار ا ہوجاتا ہے (2) کر نیہارا ۔ کرنے والا۔ کرتار۔ کیتا۔ کیا ہوا۔ کیا بیچارا ۔ کیا توفیق رکھتا ہے ۔ گت مت ۔ حالت اور اندازہ ۔ بھنڈارہ ۔ خزانہ (3) انمرت رس۔ روحانی زندگی بنانے والا لطف۔ ترپت۔ تسلی ۔ آسا۔ امید
ترجمہ معہ تشریح:
یہ ایک انسانی عقل و ہوش سے بلند اور بعید ہے حیرانگی بھری ہے جس کے بارے کچھ بیان نہیں ہو سکتا (1) رہاؤ۔ وہ قیمتی نعمتیں اور ایشا جو دنیاوی دولت کے اثرات کے تینوں اوصاف سے بیباق ہیں جو خدا ریسدہ جوگی یا سادہو اور اس کے لئے کوشاں انسان بھی اس کے بارے نہیں جانتے وہ قیمتی نعمتیں اور قیمتی اشیا یا اوصاف سچے مرشد کے خزانے میں ہیں (1) جس کی قیمت بتانے کی کسی میں توفیق نہیں نہ اسے بتا سکتا ہے نہ سنا سکتا ہے ۔ نہ کہنے اور نشانےکی کسی کو سمجھ ہے جو اسے دیکھتا ہے ۔ اسی کا ہوجاتا ہے (2) جس نے یہ کیا ہے وہی جانتا ہے جو اسکا پیدا کیا ہوا ہے ۔ اس میں کونسی توفیق ہے ۔ خدا اپنی ان قیمتی نعمتوں کا مالک ہ ۔ جس کے خزانے بھرے ہوئے ہیں۔ اور وہ خد ہی جانتا ہے کہ وہ کتنی بھاری قوت اور توفیق کا مالک ہے (3) اے نانک بتادے کہ میری امید پوری ہوگئی ایسا آب حیات کا لطف اُٹھالیا ہے کہ میری تسلی ہوگئی اور سیر ہوگیا ہوں۔

رامکلیِمہلا੫॥
انّگیِکارکیِیاپ٘ربھِاپنےَبیَریِسگلےسادھے॥
جِنِبیَریِہےَاِہُجگُلوُٹِیاتےبیَریِلےَبادھے॥੧॥
ستِگُرُپرمیسرُمیرا॥
انِکراجبھوگرسمانھیِناءُجپیِبھرۄاساتیرا॥੧॥رہاءُ॥
چیِتِنآۄسِدوُجیِباتاسِراوُپرِرکھۄارا॥
بیپرۄاہُرہتہےَسُیامیِاِکنامکےَادھارا॥੨॥
پوُرنہوءِمِلِئوسُکھدائیِاوُننکائیِباتا॥
تتُسارُپرمپدُپائِیاچھوڈِنکتہوُجاتا॥੩॥
برنِنساکءُجیَساتوُہےَساچےالکھاپارا॥
اتُلاتھاہاڈولسُیامیِنانککھسمُہمارا॥੪॥੫॥
لفظی معنی:
انگیکار۔ اپنائیا۔ امدادی ۔ ویری ۔ دشمن۔ سگلے ۔ سارے ۔ سادھے ۔ قابو کئے ۔ سد ھارے ۔ درست راستے پر لائے ۔ ایہہ جگ لوٹیا۔ یہ دنیاو لوٹی ۔ بادھے ۔ باندھے (1) پر میسور ۔ خدا ۔ راج ۔ حکمرانی ۔ رس مانی ۔ لطف لینا ۔ ناوجپی ۔ سچ و حقیقت کی یاد ۔ بھروسا ۔ بھروا (1) رہاؤ۔ چیت نہ آوس ۔ دلمیں نہیں آتیں۔ رکھوار ۔ محافظ ۔ بے پروہ ۔ بے محتاج ۔ نام کے آدھار ۔ سچ و حقیقت کے اسرے ۔ پورن۔ مکمل ۔ مکمل۔ سکھدائی ۔ سکھ یا آرام و آسائش پہنچانے والا ۔ اون کمی ۔ تت۔ حقیقت ۔ اصلییت ۔ پرم پد۔ بلند روھانی رتبہ ۔ کہو ۔ کہیں (3) برن ۔ بیان۔ الکتھ ۔ سمجھت و بیان سےباہر۔ اجل۔ جو نہ تولا نہ جا سکے ۔ انداہز نہ وہ سکے ۔ اتھاہ۔ گہرائی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا نے مجھے اپنا بنا لیا مددگار ہو گیا سارے دشمنوں کو زیر کر دیا ۔ جن دشمنوں نے سارے عالم کو لوٹا ہے انہیں باندھا دیا (1) مرشد و خدا ہے میرا ہے میرا محافظ نام سچ و حقیقت کی یاد وریاض کرا ہوں ۔ میرے بھروسے و آسرے اورحکومتی بیشمار لطف لیتا ہوں (1) رہاو۔ جسکا ہو محافظ خود خدا اس کے میں خدا کے علاوہ نہ دوسرے خیالات پیدا نہیں ہوتے ۔ اے میرے مالک تیرے نام کےساہرے دنیاوی ضرورتوں سے بے محتاجاور لاپراہ رہتا ہے ۔ (2) جسے ہر طرح کے آرام و آسائش پہنچانے والا خدا کا ملاپ ہوجائے حاصل وہ کامل انسان ہوجاتاہے ۔ کوئی کمی باقی نہیں رہتی ۔ وہ اس عالم کی بنیاد اصل حقیقت کو پا لیتا ہے اور زندگی کے مدعا و مقدس کو پا لیتا ہے اور روحانی زندگی کا بلند ترین رتبہ پا لیتا ہے ۔ اور بھٹکتا نہیں پھرتا (3) اے صدیوی عقل و ہوش سے بعید اور شمار اور اندازے سے باہر بیان نہیں کیا جا سکتا کہ تو کیسا اور کتنا بلند عظمت ہے ۔ اے نانک۔ بے مثال جسکا نہیں ثانی کوئی نہایت سنجیدہ پر سکون ہے خدا ہمارا۔

رامکلیِمہلا੫॥
توُداناتوُابِچلُتوُہیِتوُجاتِمیریِپاتیِ॥
توُاڈولُکدےڈولہِناہیِتاہمکیَسیِتاتیِ॥੧॥
ایکےَایکےَایکتوُہیِ॥
ایکےَایکےَتوُرائِیا॥
تءُکِرپاتےسُکھُپائِیا॥੧॥رہاءُ॥
توُساگرُہمہنّستُمارےتُممہِمانھکلالا॥
تُمدیۄہُتِلُسنّکنمانہُہمبھُنّچہسدانِہالا॥੨॥
ہمبارِکتُمپِتاہمارےتُممُکھِدیۄہُکھیِرا॥
ہمکھیلہسبھِلاڈلڈاۄہتُمسدگُنھیِگہیِرا॥੩॥
تُمپوُرنپوُرِرہےسنّپوُرنہمبھیِسنّگِاگھاۓ॥
مِلتمِلتمِلتمِلِرہِیانانککہنھُنجاۓ॥੪॥੬॥
لفظی معنی:
دانا۔ دانشمندی ۔ ایچل۔ صدیوی ۔ لافناہ ۔ جات ۔ ذات۔ پاتی ۔ خاندان ۔ اڈول ۔ مستقل ۔ بلا لرزش و ڈگمگاہٹ۔ تانی ۔ فکر ۔ تشویش۔ رائیا ۔ راجہ ۔ حکمران (1) رہاؤ۔ ساگر۔ سمندر۔ مانک۔ موتی ۔ لعل ۔ قیمتی پتھر۔ سنتک ۔ جھجک ۔ پس و پیش ۔ بھنچہو۔ استعمال ۔ نہالا۔ خوش (2) بارک بچے ۔ کھیرا۔ دودھ ۔ گنی گہیرا۔ بھاری اوصاف والے (3) پورن ۔ مکمل۔ سنگ ۔ ساتھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تو ہی واحد ہستی ہے ۔ تیری رحمت اور کرم و عنایت سے ہی سکھ حاصل ہوتا ہے ۔ (!) رہاؤ ۔سارے عالم پر تیری ہی حکمرانی ہے تو ہی سارے عالم کا بادشاہ ہے ۔ اے خدا تو دانشمند ہے صدیوی ہے تو ہی میری ذات اور عزت ہے تو مستقل مزاج ہے ۔ او رنہ ہی ہمارا کسی سے حسد اور نہ ہی ہے (1) اے خدا تو مانند سمندر ہے اور ہم ان ہنسوں کی مانند ہیں تیرے اندر قیمتی اوصاف موتیوں اور لعلوں کی مانند ہیں تو ہمیں دینے بانٹنے میں زرا جھجک محسوس نہیں کرتا ہم انہیں استعمال کرتے ہیں اور خوش ہوتے ہیں (2) اے کدا ہم تیرے بچے ہیں اور تو ہمارا باپ ہے ۔ اور ہمارے منہ میں دودھ ڈالتا ہے تو ہمارے ساتھ کھلتا ہے پیار کرتا ہے اور سنجیدہ با اوصاف مالک ہے (3) ت مکمل طور پر ہر جگہ بستا ہے ہماری بھی تیرے ساتھ کی وجہ سے کوئی خواہش باقی نہیں رہتی سر ریتے ہیں ۔ اے نانک جو شخص ملاپ کی کوشش کرتا ہے ۔ آخر ملاپ پاتا ہے اس کی روحانی بلندی بیان نہیں ہوسکتی ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کرکرِتالپکھاۄجُنیَنہُماتھےَۄجہِربابا॥
کرنہُمدھُباسُریِباجےَجِہۄادھُنِآگاجا॥
نِرتِکرےکرِمنوُیاناچےَآنھےگھوُگھرساجا॥੧॥
رامکونِرتِکاریِ॥
پیکھےَپیکھنہارُدئِیالاجیتاساجُسیِگاریِ॥੧॥رہاءُ॥
آکھارمنّڈلیِدھرنھِسبائیِاوُپرِگگنُچنّدویا॥
پۄنُۄِچولاکرتاِکیلاجلتےاوپتِہویا॥
پنّچتتُکرِپُتراکیِناکِرتمِلاۄاہویا॥੨॥
چنّدُسوُرجُدُءِجرےچراگاچہُکُنّٹبھیِترِراکھے॥
دسپاتءُپنّچسنّگیِتاایکےَبھیِترِساتھے॥
بھِنّنبھِنّنہوءِبھاۄدِکھاۄہِسبھہُنِراریِبھاکھے॥੩॥
گھرِگھرِنِرتِہوۄےَدِنُراتیِگھٹِگھٹِۄاجےَتوُرا॥
ایکِنچاۄہِایکِبھۄاۄہِاِکِآءِجاءِہوءِدھوُرا॥
کہُنانکسوبہُرِنناچےَجِسُگُرُبھیٹےَپوُرا॥੪॥੭॥
لفظی معنی:
کر ۔ ساتھ۔ تال۔ چھپینے ۔ پکھا وج ۔ جوڑی ۔ ماتھے ۔ پیشانی مراد ذہن۔ ربابا۔ رباب۔ ساز۔ کرنہو ۔ کان ۔ مد۔ مدھر ۔ میٹھی ۔ باسری۔ بنسری ۔ جیوا ۔ زبان۔ دھن۔ سر ۔ آواز۔ آگاجا ۔گونجتی ہے ۔ نرت ۔ ناچ ۔ گھو گھر۔ گھنگرؤ (1) نرنکاری ۔ ناچ۔ پیکھے ۔ دیکھتا ہے ۔ پیکھنہار۔ دیکھنے کی توفیق رکھنے والا۔ جیتا ۔ جتنا۔ ساج سیگاری ۔ ساز۔ سامان۔ سیگاری ۔ سجاوٹ والا۔ (1) رہاؤ۔ آکاھر منڈلی ۔ ناچ کا اکھاڑہ ۔ میدان۔ دھرن۔ زمین۔ سبائی ۔ سساری ۔ گگن ۔ آسمان۔ چندوآ۔ تنبو۔ پون ۔ ہوا۔ سانس۔ وچولا۔ درمیانی انسان ۔ وکیل ۔ اوپت۔ پیدا ۔ دل ۔ پانی ۔ تخم ۔ پنچ تت۔ پانچ بنیادی مادے ۔ پتر ۔ پتلا ۔ بت ۔ سریر ۔ کرت۔ کام۔ اعمال (2) چراغا۔ دیئے ۔ چراغ۔ چوہ ۔ کنٹ۔ چاروں طرف۔ دس پاتو۔ دس کلا کار۔ پانچ اعضائے احساس ۔ پانچ اعضائے بد اعمال۔ سنگتا ۔ گانے والے ۔ ایکے بھتر ۔ ساتھے ۔ ایک ہی جسم میں ساھتی ۔ بھن بھن ۔ علیحدہ علیحدہ ۔ بھاؤ۔ منشا۔ نراری ۔ نرالے ۔ انوکھے ۔ بھاکھے ۔ بولتے ہیں (3) ترت ۔ ناچ ۔ تورا۔ واجا۔ بوادیہہ۔ بھٹکاتے ہیں۔ دہورا۔ خاک۔ بھیٹے ۔ ملاپ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس عالم میں قائنات قدرت کا ناچ ہو رہا ہے ۔ اسے دیکھنے کی توفیق رکھنے والا خدا جس نے یہ قائنات پیدا کی ہے رحمان الرحیم اس سارے ساز و سامان سجاوٹ خو دہی دیکھ رہ اہے (1) رہاؤ۔ ہر شخص جیسا کہ اس کے اعمال نامے میں تحریر ہے ۔ سمجھو رباب بج رہی ہے ۔ زبان کا لطف گاتا ہو رہا ہے ۔ من ہاتھوں کو چھینے سمجھو اور آنکھوں کو طبلہ اور اعمال کو کنگرو ہر وقت الہٰی قائنانی سنگیت و ناچ ہو رہا ہے (1) ساری زمین اس الہٰی ناچ کے لئے ایک ناچ کا یدان یا اکھاڑا ہے اور اس کے اوپر آسمان ایک شامیانہ ہے ۔ ہوا یا سانس درمیانی وکیل یا و چولا ہے جو سب کو بلانے والا ہے اور یہ جسم پانی سے پیدا ہوتا ہے پانچوں مادیات کے ملپا سے بنائیا گیا ہے اور اعمال سے ملتا ہے (2) چاند اور سورج اور چراغ اس اگھاڑے روشنی دینے کے لئے جل رہے ہیں۔ دس کلا کار ( پاستر) اور پانچ بد احساس اس جسم میں اکٹھے بس رہے ہیں اور ہر ایک علیحدہ علیحدہ اپنا تاثر دکھا رہا ہے سب کی اپنی علیحدہ علیحدہ خواہش دکار ہے (3) روز و شب ہر اعضے میں یہ ناچ ہو رہا ہے ۔ مراد حرکت میں ہے ہر جسم میں اس دنیاوی دولت کا سنگیت ہورہا ہے ۔ اس کو ایک نچا رہے ہیں ایک بھٹکا رہے ہیں ایک ذلیل و خوار ہوکر خاک بن رہے ہیں ہے اور تناسخ میں پڑ رہے ہیں ۔ اے جس کامل مرشد ملجائے اسے دوبارہ ناچنا نہیں پڑتا۔

رامکلیِمہلا੫॥
اوئنّکارِایکدھُنِایکےَایکےَراگُالاپےَ॥
ایکادیسیِایکُدِکھاۄےَایکورہِیابِیاپےَ॥
ایکاسُرتِایکاہیِسیۄاایکوگُرتےجاپےَ॥੧॥
بھلوبھلورےکیِرتنیِیا॥
رامرماراماگُنگاءُ॥
چھوڈِمائِیاکےدھنّدھسُیاءُ॥੧॥رہاءُ॥
پنّچبجِت٘رکرےسنّتوکھاساتسُرالےَچالےَ॥
باجامانھُتانھُتجِتاناپاءُنبیِگاگھالےَ॥
پھیریِپھیرُنہوۄےَکبہیِایکُسبدُبنّدھِپالےَ॥੨॥
ناردیِنرہرجانھِہدوُرے॥
گھوُنّگھرکھڑکُتِیاگِۄِسوُرے॥
سہجاننّددِکھاۄےَبھاۄےَ॥
ایہُنِرتِکاریِجنمِنآۄےَ॥੩॥
جےکواپنےٹھاکُربھاۄےَ॥
کوٹِمدھِایہُکیِرتنُگاۄےَ॥
سادھسنّگتِکیِجاۄءُٹیک॥
کہُنانکتِسُکیِرتنُایک॥੪॥੮॥
لفظی معنی:
اونکار ۔ واحد خدا ۔ ایک ۔ واحد ۔ دھن ایکے ۔ واحد دھیان ۔ ایکے راگ الاپے ۔ واحد صفت صلاح بیان کرے ۔ ایکا ویسی ۔ ایک ہی ملک کے رہنے والے ۔ ای دکھاوے ۔ واحد کا دیدار کراتا ہے ۔ ( ایک ہی ) ایکو رہیا ویاپے ۔ دلمیں ایک ہی بستا رہے ۔ ایکا سرت واحد ممیں ہی دھیان سیوا۔ خدمت۔ ایکو گرتے جاپے ۔ واحد مرشد سے ہی خدا کی سمجھ لیتا ہے (1) کیرتنیا۔ صفت صلاح کرنے والا۔ رما۔ سب میں بسنے والا ۔ گن گاؤ۔ صفت صلاح کرؤ ۔ سوآ ؤ۔ غرض (1) رہاؤ۔ پنچ بجتر۔ پانچ سنگیتی ساز ۔ مان ۔ وقار۔ تان۔ طاقت۔ قوت ۔ تانا۔ راگ پلٹا۔ پاؤ۔ پاؤں ۔ بیگا۔ ٹیڑھا ۔ پھیری پھیر ۔ دوبارہ جنم نہ لیتا پڑے بندھ پائے فطار باندھے (2) ناوری ۔ نارو کے سے کام۔ نر یر۔ خدا۔ خدورے ۔ حاضر ناظر۔ تیاگ وسورے ۔ غم بھلانا۔ سہج انند ۔ روحانی مستقل مزاجی ۔ بھاوے ۔ چاہے ۔ نرنکاری ۔ ناچ (3) ٹھاکر بھاوئے ۔ مالک کا چاہیتا یا پیرا۔ کوٹ مدھ ۔ کروڑوں میں سے ۔ ٹیک۔ آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی حمدوثناہ کرتا ہے وہ ہی ہے اچھا کلا کار ۔ رہاؤ ۔ وہ خدا سے محبت کرتا ہے واحد خدا کی ہی حمدوثناہ کرتا ہے ۔ دوسروں کو خدا کا ہی ہمنوا ہو ایک ویس کا رہنے والا ہو اسے ہی جگہ بستا دکھائیے اسی میں دھیان ہو اسی کی خدمت کرے جس کی پہچان مرشد کراتا ہے (1)(ست) سچ ۔ صبر ۔ رحم۔ فرض۔ مستقل مزاج کو پانچ تاروں والا سا سمجھے اور دنیاوی محنت و مشقت سے کاروبار کرنا ہی سات سریں ہے ۔ وقار و قوت کا بھروسا چھوڑنا ہی ایک باجہ ہے ۔ برائی کی طرف رحجان نہ کرنا تان یا سر پلٹنا ہے ۔ وہ سبق مرشد ذہن نشین کرتا ہے ۔ تناسخ میں نہ پڑنا ناچ میں گیڑا لگانا ہے (2) جو خدا کو ساتھ اور حاضر ناظر سمجھنا ہی نادری ہے ۔ فکر و تشویش چھوڑ دینا گھر نگروں کی جھنکار ہے ۔ روحانی سکون اور مستقل مزاجی ناچ کی کلام کا دکھاوا ہ ۔ جو انسان ایسا ناچ ناچتا ہے اسے تناسخ میں نہیں پڑنا پڑتا (3) اگر کوئی خدا کا پیارا ہوجائے گرڑوں میں سے کوئی ہے یہ صفت صلاح کرتا ہے ۔ اے نانک بتادے پاکدامن ساتھیوں کا آسرا لو کیونکہ پاکدامن ساتھیوں کے لئے حمدوثناہ ہی ایک سہارا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کوئیِبولےَرامرامکوئیِکھُداءِ॥
کوئیِسیۄےَگُسئیِیاکوئیِالاہِ॥੧॥
کارنھکرنھکریِم॥
کِرپادھارِرہیِم॥੧॥رہاءُ॥
کوئیِناۄےَتیِرتھِکوئیِہججاءِ॥
کوئیِکرےَپوُجاکوئیِسِرُنِۄاءِ॥੨॥
کوئیِپڑےَبیدکوئیِکتیب॥
کوئیِاوڈھےَنیِلکوئیِسُپید॥੩॥
کوئیِکہےَتُرکُکوئیِکہےَہِنّدوُ॥
کوئیِباچھےَبھِستُکوئیِسُرگِنّدوُ॥੪॥
کہُنانکجِنِہُکمُپچھاتا॥
پ٘ربھساہِبکاتِنِبھیدُجاتا॥੫॥੯॥
لفظی معنی:
کارن ۔ سبب ۔ کریم ۔ بخشند ۔ بخشنے والا۔ رحیم ۔ مہربان (1) رہاؤ۔ سر نوائے ۔ سجدہ کرتا ہے ۔ پوجا ۔ پرستش (2) کتیب ۔ قران مجید ۔ اوڈتھے ۔ پہنتا ہے ۔ نیل۔نیلا سپید ۔ سفید (3) ترک ۔ مسلمان ۔ باچھے ۔ چاہتا ہے ۔ بخشت ۔ بہشت۔ سر یگندو ۔ اندر کا سورگ (4) حکم ۔ فرامن۔ بھید ۔ راز۔ گو بلیا ۔ گور معنے ۔ سیئیا ۔ مالک مراد مالک عالم ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے سبب بنانےوالے بخشنہار رحمان کرم و عنایت فرما (1) رہاؤ ۔ کوئی رام رام کہتا ہے اور کوئی خدا خدا ۔ کوئی گو سائیں کہتا ہے اور اس کی خدمت کرتا ہے اور کوئی اللہ کہہ عبادت کرتا ہے (1) کوئی تیرتھوں پر اشنان کرتا ہے تو کوئی کعبہ کے حج کے لئے جاتا ہے ۔ کوئی مورتی پوجتا ہے پرستش کرتا ہے تو کوئی نماز ادا کرتا ہے اور سجدہ کرتا ہے سر جھکاتا ہے ۔ مرا دونوں تغیطم کرتے ہیں (2) کوئی ویدوں کا پاٹھ کرتا ہے تو کوئی سفید پہنتا ہے (3) کوئی کہتا ہے مسلمان کوئی کہتے ہندو ۔ کوئی بہشت کی خواہش کرتا ہے ۔ کوئی اندر کا سور ۔ اے نانک بتادے ۔ کہ جس نے فرض و فرمان الہٰی کی پہچان کر لی اس نے راز الہٰی سمجھ لیا ۔

رامکلیِمہلا੫॥
پۄنےَمہِپۄنُسمائِیا॥
جوتیِمہِجوتِرلِجائِیا॥
ماٹیِماٹیِہوئیِایک॥
روۄنہارےکیِکۄنٹیک॥੧॥
کئُنُموُیارےکئُنُموُیا॥
ب٘رہمگِیانیِمِلِکرہُبیِچارااِہُتءُچلتُبھئِیا॥੧॥رہاءُ॥
اگلیِکِچھُکھبرِنپائیِ॥
روۄنہارُبھِاوُٹھِسِدھائیِ॥
بھرمموہکےباںدھےبنّدھ॥
سُپنُبھئِیابھکھلاۓانّدھ॥੨॥
اِہُتءُرچنُرچِیاکرتارِ॥
آۄتجاۄتہُکمِاپارِ॥
نہکوموُیانمرنھےَجوگُ॥
نہبِنسےَابِناسیِہوگُ॥੩॥
جواِہُجانھہُسواِہُناہِ॥
جاننھہارےکءُبلِجاءُ॥
کہُنانکگُرِبھرمُچُکائِیا॥
ناکوئیِمرےَنآۄےَجائِیا॥੪॥੧੦॥
لفظی معنی:
پون ۔ ہوا۔ جوتی ۔ نور ۔ ماٹی ۔ مٹی ۔ کون ۔ کونسا۔ ٹیک۔ آسرا (1) کون موا ۔ کس کی موت ہوئی ۔ برہم گیانی ۔ روحانیت کو سمجھنے والا۔ الہٰی شناخت کار ۔ خدا شناس ۔ چلت بھیا۔ کھیل۔ تماشہ ہوا (1) رہاؤ۔ اگلی ۔ عاقبت۔ اوٹھ سدھائی ۔ اُٹھ کے چلا جاتا ہے ۔ بندھ ۔ غلامی ۔ بھرم۔ وہم گمان۔ موہ ۔ محبت۔ سپن ۔ خواب۔ بھکھالئے ۔ میں بڑ بڑانا۔ اندھ ۔ اندھیرے می اندھا (2) رچن۔ رچنا۔ بناوٹ۔ حکم اپار۔ ایسا فرمان جو اتنا وسیع کہ کنار نہیں ۔ جوگ۔ قابل۔ لائق (3) جو ایہہ جانیو ۔ جیسا سمجھتے ہو ۔ سو۔ ویسا۔ ایہہ ناہے ۔ یہ نہیں ہے ۔ بھرم چکائیا۔ یہ وہم یہ گمان مٹا دیا ۔ نہ کوئی مرے نہ آوئے جائیا ۔ نہ کوئی مرتا ہے نہ پیدا ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں کون موآ کسی خدا شناس روحانی عالم سے ملکر خیال آرائی کرؤ سمجھو دراصل یہ تو ایک کھیل اور تماشہ ہے (1) رہاؤ۔ ہوا مراد سانسمیں ہوا مل گئی ۔ رونے والا کو کونسا آسرا ہے مراد گمراہی اور بھول میں روتا ہے (1) عاقبت کی خبر نہیں رونے والا بھی چلا جائیگا ۔ صرف محبت کی غلامی میں بندھا ہوا انسان اندھا خواب میں برا بڑاتا ہے (2) یہ تو قادر نے ایک کھیل بنائیا ہے اور موت و پیدائش کا فرمان جاری ہے ۔ جو نہ ختم ہونے والا وسیع فران ہے ۔ نہ کوئی مرتا ہے نہ مرنے کے قابل۔ نہ یہ ختم ہوتا ہے لافناہ ہے (3) اے انسانوں جیسا اسے سمجھ رہے ہو ایسا نہیں ہے ۔ قربان ہوں اس پر جس نے اس کی اصلیت کو سمجھ لیا ہے ۔ اے نانک۔ بتادے مرشد نے یہ بھٹکن مٹا دی کہ نہ کوئی پیدا ہوتا نہ مرتا ہے ۔ مراد روح جو الہٰی نور کا ایک جز ہے نور میں مل جاتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
جپِگوبِنّدُگوپاللالُ॥
رامنامسِمرِتوُجیِۄہِپھِرِنکھائیِمہاکالُ॥੧॥رہاءُ॥
کوٹِجنمبھ٘رمِبھ٘رمِبھ٘رمِآئِئو॥
بڈےَبھاگِسادھسنّگُپائِئو॥੧॥
بِنُگُرپوُرےناہیِاُدھارُ॥
بابانانکُآکھےَایہُبیِچارُ॥੨॥੧੧॥
لفظی معنی:
توں جیویہہ۔ تاکہ تو زندہ رہے ۔ رام نام سمر۔ الہٰی نام سچ و حقیقت یاد رکھ ۔ مہا کال۔ تاکہ تیری روحانی موت ۔ نہ ہوئے ۔ (!) رہاؤ۔ کوٹ جنم ۔ کروڑوں جنم۔ بھرم بھرم۔ بھٹک بھٹک ۔ گمراہ ہوکر۔ وڈے بھاگ ۔ بند قسمت سے ۔ سادھ سنگ پائیو ۔ صحبت و قربت پاکدمناں نصیب ہوئی (1) بن گر پورے ۔ بغیر کامل مرشد۔ ادھار۔ کامیابی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان اس خدا کو یاد کیا کر الہٰی نام سچ و حقیقت کی یاد سے روحانی واخلاقی موت واقع نہیں ہوتی ۔ رہاؤ۔ اے انسان بیشمار بھٹکنے اور گمراہی ے بعد یہ زندگی حاصل ہوئی ہے ۔ بلند قسمت سے پارساؤں پاکدامنوں کی صحبت نصیب ہوئی ہے (1) بغیر کامل مرشد کامیابی نہیں مراد صراط مستقیم زندگی کا پتہ نہیں چلتا اس لئے زندگی کامیاب نہیں ہوتی ۔ نانک تجھے یہ خیال سوچ سمجھ کر بتا یا ہے ۔

راگُرامکلیِمہلا੫گھرُ੨
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
چارِپُکارہِناتوُمانہِ॥
کھٹُبھیِایکاباتۄکھانہِ॥
دساسٹیِمِلِایکوکہِیا॥
تابھیِجوگیِبھیدُنلہِیا॥੧॥
کِنّکُریِانوُپۄاجےَ॥
جوگیِیامتۄارورے॥੧॥رہاءُ॥
پ٘رتھمےۄسِیاستکاکھیڑا॥
ت٘رِتیِۓمہِکِچھُبھئِیادُتیڑا॥
دُتیِیااردھواردھِسمائِیا॥
ایکُرہِیاتاایکُدِکھائِیا॥੨॥
ایکےَسوُتِپروۓمنھیِۓ॥
گاٹھیِبھِنِبھِنِبھِنِبھِنِتنھیِۓ॥
پھِرتیِمالابہُبِدھِبھاءِ॥
کھِنّچِیاسوُتُتآئیِتھاءِ॥੩॥
چہُمہِایکےَمٹُہےَکیِیا॥
تہبِکھڑےتھانانِککھِڑکیِیا॥
کھوجتکھوجتدُیارےآئِیا॥
تانانکجوگیِمہلُگھرُپائِیا॥੪॥
اِءُکِنّکُریِآنوُپۄاجےَ॥
سُنھِجوگیِکےَمنِمیِٹھیِلاگےَ॥੧॥رہاءُدوُجا॥੧॥੧੨॥
لفظی معنی:
چار پکاریہہ ۔ چاور وید بتاتے ہیں۔ کھٹ ۔ چھ شاشتر۔ دکھا نیہہ۔ بیان کرتے ہیں۔ دس اسٹی ۔ اٹھارہ پران۔ ایکو کہدیا۔ ایک ہی بات کہی ہے ۔ بھید۔ راز ۔ لہئیا ۔ پائیا (1) کنکری ۔ ایک ساز۔ انوپ ۔ انوکھی ۔ متوار و مست (1) رہاؤ۔ پرتھمے ۔ پہلے ۔ ست۔ سچ ۔ کھڑا۔ گاوں۔ ترتیئے ۔ ۔ دنیا کے وقت کے تیسرے دور میں۔ دتڑا۔ دراڑ۔ فرق۔ دنیا۔ میر تیر ۔ میرا ۔ تیرا ۔ ایکدوسرے میں آپسی فرق۔ اردھو اردھ ۔ ادتھو ادھی ۔ ایکو رہیا تا ایک دکھائیا ۔ پھر واحد ہی رہ گیا اور واحد خدا کی ہی ہر جا بستا دکھائیا ہے (2) پروئے نیئے ۔ من کے ایک ہی دھاگے میں پروئے ہیں۔ گاٹھی بھن بھن ۔ گانٹھین علیحدہ علیحدہ ۔ شکلیں ۔ شخصیتیں ۔ مالا۔ مراد عالم۔ بہو بدھ۔ بہت سے طریقوں سے ۔ کھنچیا سوت ۔ دھاگا کھنیچا ۔ مراد اس عالم سے خدا نے اپنی طاقت کھنیچ لی ۔ آئی تھائے ۔ تو یکسو ہوئی ۔ مراد قیامت پرپا ہوئی ۔ خداواحد رہ گیا (3) چوہ میہہ۔ چاروں میں۔ مٹھ ۔ مندر۔ جسم۔ دکھڑے ۔ دشوار۔ انک کھڑ کیا۔ گورلکا۔ دروازے ۔ کھوجت ۔ کھوجت ۔ ڈہونڈے ڈہونڈتے ۔ محل گھر ۔ اصل ٹھکانہ ۔ انوپ ۔ انوکھی ۔ میٹھی ۔ اچھی ۔ پر لطف ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے جوگی انوکھی کنگری بج رہی ہے عالم کی تو اپنی کنگری میں تیوا لا اور مست ہو رہا ہے (1) رہاؤ۔ چاروں وید بلند آواز کہہ رہے ہیں مگر تو نہیں مانتا اور چھ شاشتر بھی یہی کہہ رہے ہیں۔ اٹھارہ پرانوں نے بھی یہی بتائیا ہے کہ ہر دل میں الہٰی نور کی رؤ جاری ہے مگر تو یقین نہیں کرتا ۔ نہ اس راز کو سمجھ رہا ہے (1)
سب سے اول یہ عالم سچ ۔ حق اور حقیقت کا عالم شہر یا گا ؤں تھا میرا دیر زندگی کی رو میں سچائی تھی ۔ اس کے بعد تر یتے یگ یا زمانے میں کچھ اس میں دراڑ پیدا ہوگئی فرض انسانی میں ایک چوتھائی کی کمی واقع ہوگئی ۔ اس کے بعد دو آپر یگ یا زمانے میں فرض انسانی میں مزید کمی واقع ہوئی فرض شناشی آدھی رہ گئی ۔ مگر اب اس دور میں رہنمائےز ندگی کے لئے وا حد خدا کی ہی ہستی ہے جس میں کسی زمانے میں کوئی تبدیلی واقع نہیں ہوتی سب میں یکساں واحد خدا کا ہی نور نظر اتا ہے (2) جیسے ایک تسبیح میں بہت سے منکے پروئے ہوتے ہیں گو سوت دھاگا ہے مگر گانٹھیں علیحدہ ہیں اس طرح سے گو عالم ایک ہے مگر اس میں علیحدہ علیحدہ رنگوں نسلوں اور فرقوں کے لوگوں کو قانون قدرت نے اپنے نظام میں اس مالا کے منکوں کی طرف گانٹھوں سے باندھ رکھا ہے اور یہ دنیاوی چکر اسی مالا کی طرح جاری رہتا ہے جس میںط رز و طنز اور طریقے خدا استعمال کرتا ہے ۔ جب خدا اس تسبیح یا مالا ہے اپنی قوت یا دھاگا اسے تسبیح یا مالا سے کھنچ لیتا ہے تو قیمات برپا ہوجاتی اور خدا واحد رہ جاتا ہے ۔ سارا عالم وا حدا خدا میں مجذوب ہوجاتا ہے (3) چاروں جگہوں یا زمانوں میں جوگیوں کے مٹھ کی طرف یہ عالم بنائیا ہے جہان شوار جگہیں۔ ہیں جہاں انسان ذلیل و خوار ہوتا ہے دشوار اس لئے ہے کہ اس راز کو سمجھنا دشوار ہے اور ان تنگ وقار نگ تاریک کھڑکیوں یا راستے سے زندگی کا سفر جاری رکھنا پڑتا ہے ۔ اے نانک۔ ہر کہ جہد یا بد ۔ جو کھو جتا ہے پاتا ہے ڈہونڈنے سےا لہٰی در پر پہنچ جاتا ہے (4)
اس طرح اس عالم کی انوکھی زندگی کی رو رمک رہی ہے جو اس جوگی کی کنگری کی مانند ہے جو الہٰی عاشق کو پیاری پر لطف معلوم ہوتی ہے (1) رہاؤ دوجا ۔

رامکلیِمہلا੫॥
تاگاکرِکےَلائیِتھِگلیِ॥
لءُناڑیِسوُیاہےَاستیِ॥
انّبھےَکاکرِڈنّڈادھرِیا॥
کِیاتوُجوگیِگربہِپرِیا॥੧॥
جپِناتھُدِنُریَنائیِ॥
تیریِکھِنّتھادودِہائیِ॥੧॥رہاءُ॥
گہریِبِبھوُتلاءِبیَٹھاتاڑیِ॥
میریِتیریِمُنّد٘رادھاریِ॥
ماگہِٹوُکات٘رِپتِنپاۄےَ॥
ناتھُچھوڈِجاچہِلاجنآۄےَ॥੨॥
چلچِتجوگیِآسنھُتیرا॥
سِنّگنْیِۄاجےَنِتاُداسیرا॥
گُرگورکھکیِتےَبوُجھنپائیِ॥
پھِرِپھِرِجوگیِآۄےَجائیِ॥੩॥
جِسنوہویاناتھُک٘رِپالا॥
رہراسِہماریِگُرگوپالا॥
نامےَکھِنّتھانامےَبسترُ॥
جننانکجوگیِہویااستھِرُ॥੪॥
اِءُجپِیاناتھُدِنُریَنائیِ॥
ہُنھِپائِیاگُرُگوسائیِ॥੧॥رہاءُدوُجا॥੨॥੧੩॥
لفظی معنی:
تاگا۔ ناڑیاں۔ شریان ۔ بھگلی ۔ ٹاکی ۔ جوڑ ۔ لو۔ نگندے ۔ توپے ۔ سوا۔ سوئی۔ استھی ۔ استھی ۔ ہڈی ۔ انبھے ۔ پانی ۔ خون۔ ڈنڈا ۔ جسم۔ گربیہہ۔ غرور کرتا ہے (1) ناتھ ۔ مالک۔ خدا۔ دن رینائی ۔ رات دن ۔ شب و روز۔ کھنتھا۔ گودڑی ۔ کفنی ۔ دوہائی ۔ دو دروازے ۔ دو دن (1) رہاؤ۔ گہری ۔ زیادہ ۔ ببھوت ۔ راکھ ۔ تاڑی ۔ سمادھی ۔د ھیان میں۔ یکسوئی ۔ میری تیری ۔ دوئی دوئت ۔ مندرا۔ مندراں۔ ٹوکا ۔ ٹک ۔ روٹی ۔ ترپت ۔ صبر۔ ناتھ ۔ خدا۔ جاچیہہ۔ مانگتا ہے ۔ لاج ۔ حیا۔ شرم (2) چلچت ۔ ڈگمگاتا دل ۔ آسن۔ ٹھکانہ ۔ اداسیر ۔ غمیگنی ۔پریشانی ۔ گر گورکھ ۔ خدا۔ بوجھ ۔ سمجھ ۔ پہچان۔ آوے جائی ۔ آواگون ۔ تناسخ (3) ناتھ کر پالا۔ مہربانی خدا۔ رہراس ۔ گذارش عرض ۔ نامے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت۔ کھنتھا ۔ کفنی ۔ بستر ۔ کپڑے ۔ استھر ۔ مستقل مزاج (4) گر گو سائیں۔ مالک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
روز و شب یاد خدا کو کیا کر یہ زندگی دو دروازہ ہے جوگی (1) رہاؤ۔ شریان یا تاڑیوں کو دھاگا بنا کر سارے اعضائے جسمانی کو آپس میں جوڑا ہے ۔ یہ جسمانی شریان توپے یا نگدنوں کا کام کر رہی ہیں اور ہڈیا ں سوئی کا کام کر رہی ہیں ماں کے خون اور باپ کے تخم یا پانی سے جسم گھڑا کیا بنا ہے ۔ لہذا اس جسمانی گودڑی کا کیا غرور کر رہا ہے ۔ مغرور ہو رہا ہے (1) اچھی طرح پوری سر یر پر راکھ یا سوآہ لگا دھیان لگائے بیٹھا ہے ۔ کانوں میں مندراں ڈال رکھی ہے ۔ مگر تیرے دل میں دوئی دویت بس رہی ہے ۔ گھر گھر روٹی یا بھیک مانگتا پھرتا ہے مگر دلمیں تسکین نہیں۔ خدا کو چھوڑ کر لوگوں کے در پر بھیک مانگتا ہے ۔ اے جوگی کیا تجھے اس کی شرم محسوس نہیں ہوتی (2) اے جوگی جب تیرا ڈگمگا رہا ہے دل تو تیر ا آسن سمادھی یا یکسوئی بیکار ہے ۔ سنگھی تو لوگوں کو دکھاوا کے طور پر بج رہی ہے مگر دل بیقرار ہے ۔ لہذا تو نے خدا اور حقیقت کو نہیں سمجھا۔ بار بار تناسخ میں پڑا رہتا ہے (3) جس پر مہربان ہوتا ہے خدا وہ صرف خدا سے ہی کرتا ہے عرض و معروض اور کہتا ہے اے خدا تیرا نام سچ و حقیقت میرے لئے کنفی و گودڑی اور سچ و حقیقت ہے میرے لئے کپڑے ۔ اے نانک ۔ ایسا انسان ہی حقیقی جوگی ہے ۔ وہ کبھی ڈگمگاتا نہیں (4) جس نے اس طرح یاد کیا ہے خدا اس نے پا لیا ہے خدا (1) رہاؤ۔ دوجا

رامکلیِمہلا੫॥
کرنکراۄنسوئیِ॥
آنندیِسےَکوئیِ॥
ٹھاکُرُمیراسُگھڑُسُجانا॥
گُرمُکھِمِلِیارنّگُمانا॥੧॥
ایَسورےہرِرسُمیِٹھا॥
گُرمُکھِکِنےَۄِرلےَڈیِٹھا॥੧॥رہاءُ॥
نِرملجوتِانّم٘رِتُہرِنام॥
پیِۄتامربھۓنِہکام॥
تنُمنُسیِتلُاگنِنِۄاریِ॥
اندروُپپ٘رگٹےسنّساریِ॥੨॥
کِیادیۄءُجاسبھُکِچھُتیرا॥
سدبلِہارِجاءُلکھبیرا॥
تنُمنُجیِءُپِنّڈُدےساجِیا॥
گُرکِرپاتےنیِچُنِۄاجِیا॥੩॥
کھولِکِۄارامہلِبُلائِیا॥
جیَساساتیَسادِکھلائِیا॥
کہُنانکسبھُپڑداتوُٹا॥
ہءُتیراتوُمےَمنِۄوُٹھا॥੪॥੩॥੧੪॥
لفظی معنی:
کرن کراون سوئی ۔ کرنے اور کرانے والا ہے وہی ۔ آن۔ دوسرا۔ ویسے ۔ دکھائی دیتا۔ سگھڑ سجانا۔ دانشمند۔ مستقل مزاج۔ گورمکھ ۔ مرشد کے وسیلے سے ۔ رنگ مانا۔ روحانی سکون پائیا (1) ہر رس ۔ الہٰی لطف۔ میٹھا ۔ ضائقہ ۔ پر لطف۔ رہاؤ۔ نرمل جوت ۔ زندگی کو روحانی واخلاقی طور پر بہتر بنانے والا۔ ہر نام۔ الہٰی نام۔ نیہکام ۔ نجات ۔ بے غرض ۔ بلا خواہش۔ اگن ۔ خواہشات کی جلن ۔ نواری ۔دور کی ۔ انند روپ ۔ پر سکون ۔ پر گٹے سنساری ۔ دنیا میں شہرت پائے ہیں (2) دیوؤ ۔ دیں۔ سمجھ کچھ ۔ ہر شے ۔ صدبلہار ۔ سو بار قربان۔ تن من ۔ د ل و جان۔ جیو پنڈ ۔ روح اور جسم۔ ساجیا۔ پیدا کیا۔ نیچ تواجیا۔ نیچے نا چیز کو عظمت و حشمت بخشی (3) کھول کوار۔ کواڑ ۔ دروازہ ۔ محل۔ ٹھکانے ۔ دربار الہٰی۔ پڑدہ ۔ راز افشاں ہوا۔ من دوٹھا۔ دلمیں بسائیا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں الہٰی لطف ایسا مزیدار ہے ۔ کسی مرید مرشد نے ہی اسکا دیدار کیا ہے (1) رہاؤ۔ پر تما ہی سبھ کچھ کرنے کی و کرانے کی توفیق رکھتا ہے اور کرانے والا ہے اس کے بغیر دکھائی نہیں دیتی دوسری ہستی کوئی ۔ میرا آقا مستقل مزاج اور دانشمند ہے ۔ مرشد کے وسیلے سے ملاپ کر نے سے روحانی سکون ملتا ہے (1) ایک نور اور آب حیات ہے نام الہٰی ۔ اس کے پینے سے روحانی ملتی ہے ۔ زندگی اور کوئی خواہش باقیمت نہیں رہتی ۔ ہر وقت پر سکون رہتے ہیں ۔ اور دنیا میں عظمت و حشمت پاتے ہیں (2) اے خدا کیا بھینٹ کروں پیش کروں تجھے جب سبھ کچھ ہی ہے تمہارا سو بار قربان ہوں تجھ پر اور یہ دل وجان روح و جسم عنایت مجھے پیدا کیا ہے ۔ اور رحمت مرشد سے مجھ ناچیز کو عظمت و حشمت عنایت کی ہے (3) اب خدا نے درمیانی پردہ دور کرکے پاس ہے بلائیا ہے ۔ جیسا وہ ہے ویسا دکھلا دیا ۔ اے نانک بتادے کہ اب پردہ دور ہوگیا میں تیرا ہو گیا اور تو میرے دل میں بس گیا ۔

رامکلیِمہلا੫॥
سیۄکُلائِئواپُنیِسیۄ॥
انّم٘رِتُنامُدیِئومُکھِدیۄ॥
سگلیِچِنّتاآپِنِۄاریِ॥
تِسُگُرکءُہءُسدبلِہاریِ॥੧॥
کاجہمارےپوُرےستگُر॥
باجےانہدتوُرےستگُر॥੧॥رہاءُ॥
مہِماجاکیِگہِرگنّبھیِر॥
ہوءِنِہالُدےءِجِسُدھیِر॥
جاکےبنّدھنکاٹےراءِ॥
سونرُبہُرِنجونیِپاءِ॥੨॥
جاکےَانّترِپ٘رگٹِئوآپ॥
تاکءُناہیِدوُکھسنّتاپ॥
لالُرتنُتِسُپالےَپرِیا॥
سگلکُٹنّباوہُجنُلےَترِیا॥੩॥
ناکِچھُبھرمُندُبِدھادوُجا॥
ایکوایکُنِرنّجنپوُجا॥
جتکتدیکھءُآپِدئِیال॥
کہُنانکپ٘ربھمِلےرسال॥੪॥੪॥੧੫॥
لفظی معنی:
سیوک ۔ خدمتگار۔ سیو ۔ خدمت۔ انمرت۔ آبحیات ۔ دیو ۔ دیوتے ۔ سگلی چتتا۔ سارے فکر ۔ نواری ۔ مٹائی ۔ دور کی (1) کاج ۔ کام ۔ مقصد۔ انحد۔ لگاتار۔ تورے ۔ باجے ۔ ساز بجا (1) رہاؤ۔ مہما ۔ عظمت۔ گہر گنبھیر ۔ نہایت سنجیدہ ۔ نہال ۔ خوش۔ دھر ۔ دھیرج ۔ دالاسا۔ بندھن۔ غلامی ۔ رائے ۔ راجہ ۔ بہور ۔ دوبارہ ۔ جونی ۔ جنم ۔ (2) پر گٹیو۔ ظہور پذیر ہوا۔ ظاہر۔ سنتاپ ۔ اندرونی عذاب۔ پالے ۔ پلے ۔ دامن۔ سگل کٹنب۔ سارے خاندان یا قبیلہ ۔ لے تریا۔ کامیاب بنائیا (3) بھرم بھٹکن ۔ ذہنی تشویش ۔ دبدھا۔ دوچتی ۔ دوجا۔ دوئت ۔ اپنا ۔ پرائیا۔ نرنجن۔ پاک۔ بیداغ۔ رسا۔ چشمہ لطف ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تو نے ہمارے کام مکمل کر دیئے اب خوشی کے شادیانے ہو رہے ہیں (1) راؤ۔ جس نے خدمتگار کو اپنی خدمت میں لگائیا ۔ آب حیات نام جس انسان کے دلمیں بس جاتا ہے اخلاق اور زندگی روحانی ہوجاتی ہے ۔ منہ میں بساد یا اور ساری فکر و تشویش خود مٹا دی اس مرشد پر قربان ہوں سو بار (1) جس کی عظمت و حشمت ہے بیشمار ۔ ہوکر خوش دیتا ہے ۔ دلاسا جس کی گلامی کی زنجیروں کاٹا دیتا ہے ۔ اسکا مٹ جاتا ہے تناسخ (2) جس کے اندر ظہور پذیر ہوجاتاہے اسے عذاب اور جھگڑے ستاتے ہیں۔ اس کے دامن بیش بہا قیمتی نام پڑ جاتا ہے ۔ اسکا سارا خاندان ہی کامیابیاں پاتا ہے ۔ جو پاک بیداغ خدا کی پرستش کرتا ہے ۔ نہ اسے وہم وگمان و بھٹکن رہتی ہے نہ دوچتی اور نہ اپنا او ر پرائے کا خیال دمیں بستا ہے ۔ اے نانک بتادے کہ جدھر جاتی ہے نظر رحمان الرحیم دیکھتا ہوں اور چشمہ سکون پا لیا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
تنتےچھُٹکیِاپنیِدھاریِ॥
پ٘ربھکیِآگِیالگیِپِیاریِ॥
جوکِچھُکرےَسُمنِمیرےَمیِٹھا॥
تااِہُاچرجُنیَنہُڈیِٹھا॥੧॥
ابموہِجانیِرےمیریِگئیِبلاءِ॥
بُجھِگئیِت٘رِسننِۄاریِممتاگُرِپوُرےَلیِئوسمجھاءِ॥੧॥رہاءُ॥
کرِکِرپاراکھِئوگُرِسرنا॥
گُرِپکراۓہرِکےچرنا॥
بیِسبِسُۓجامنٹھہرانے॥
گُرپارب٘رہمایکےَہیِجانے॥੨॥
جوجوکیِنوہمتِسکےداس॥
پ٘ربھمیرےکوسگلنِۄاس॥
ناکودوُتُنہیِبیَرائیِ॥
گلِمِلِچالےایکےَبھائیِ॥੩॥
جاکءُگُرِہرِدیِۓسوُکھا॥
تاکءُبہُرِنلاگہِدوُکھا॥
آپےآپِسربپ٘رتِپال॥
نانکراتءُرنّگِگوپال॥੪॥੫॥੧੬॥
لفظی معنی:
اپنی دھاری ۔ اپنا پن ۔ آپا۔ خوئش پن ۔ آگیا۔ فرمان حکم۔ میٹھا۔ پیارا۔ اچرج ۔ حیران کرنے والا۔ نینہو ۔ آنکھوں سے ۔ ظاہر (1) بلائے ۔ محبت۔ ترسن۔ خواہشات کی جلن ۔ نواری ۔ مٹائی ۔ دور کی ۔ ممتا۔ اپنے اور غیر کی ہوس۔ گر پورے ۔ کامل مرشد (1) رہاؤ۔ بیس بسوے ۔ مکمل طور پر ۔ (2) جو جو کینے جو جو پیدا کئے ۔ داس ۔ خدمتگار ۔ سگل نواس۔ سب میں بستا ہے ۔ دوت ۔ دشمن۔ بیرائی ۔ دشمن (3) سوکھا ۔ سکھ آرام ۔ دوکھا ۔ دکھ ۔ پر تپال۔ پرورش۔ راتو ۔ محو۔ رن ۔ پریم ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اب مجھے میں نے اخلاق و روحانیت کو سمجھ لیا ہے ۔ خواہشات کی آگ اور جلن مٹ گئی ہے اور اپنے پن اور خودی مٹا دی اور کامل مرشد نے سمجھا دیا ہے (1 ) رہاؤ۔ اب جسم سے یہ جھوٹا یہ خیال ختم ہو گیا ہے کہ میرا ہے مراد خوئشتا مٹ گئی ۔ رضائے الہٰی سے پیار ہوگیا ۔ خدا جو کرتا ہے مجھے پیارا لگتا ہے ۔ اب یہ حیران کرنے اوالا کھیل آنکھوں سے دیکھ رہا ہوں (1) مرشد نے اپنی کرم و عنایت سے اپنے زیر سایہ رکھا ہو اہے ۔ اور مجھے خدا کا دامن پکڑا دیا ہے اور پائے الہٰی کا گرویدہ ہوگیا ہوں اور مستقل مزاج ہوگیا ہوں (2)
خدا نے جو پیدا کئے ہیں میں ان کا خدمتگار ہوں۔ کیونکہ میر ے خدا سب میں نواس ہے خدا سب میں بستا ہے ۔ کوئی دشمن نہیں اور سب سے میل ملاقات ہے بھائیوں کی طرح رہتا ہوں (3) جسے مرشد نے یہ سبق و نصیحت کردی اسے اس پر دکھ اپنا تاثر ڈال سکتے اور نہ دوبارہ عذاب آئیگا ۔ خدا خود سب کی پرورش کرنے والا پروردگار ہے ۔ اے نانک۔ وہ الہٰی پریم پیار میں محو و مجذوب رہتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
مُکھتےپڑتاٹیِکاسہِت॥
ہِردےَرامُنہیِپوُرنرہت॥
اُپدیسُکرےکرِلوکد٘رِڑاۄےَ॥
اپناکہِیاآپِنکماۄےَ॥੧॥
پنّڈِتبیدُبیِچارِپنّڈِت॥
منکاک٘رودھُنِۄارِپنّڈِت॥੧॥رہاءُ॥
آگےَراکھِئوسالگِرامُ॥
منُکیِنودہدِسبِس٘رامُ॥
تِلکُچراۄےَپائیِپاءِ॥
لوکپچاراانّدھُکماءِ॥੨॥
کھٹُکرماارُآسنھُدھوتیِ॥
بھاگٹھِگ٘رِہِپڑےَنِتپوتھیِ॥
مالاپھیرےَمنّگےَبِبھوُت॥
اِہبِدھِکوءِنترِئومیِت॥੩॥
سوپنّڈِتُگُرسبدُکماءِ॥
ت٘رےَگُنھکیِاوسُاُتریِماءِ॥
چتُربیدپوُرنہرِناءِ॥
نانکتِسکیِسرنھیِپاءِ॥੪॥੬॥੧੭॥
لفظی معنی:
ٹیکا۔ مطلب۔ ترجمہ معہ تشریح: ۔ پورن رہت۔ رہنی ۔ رہنے کا طریق ہ۔ اپدیس ۔ نصیحت۔ سبق۔ واعط۔ دڑاوے ۔ پختہ کراتا ہے ۔ کماوے ۔ عمل نہیں (1) وچار۔ سمجھ ۔ کرودھ ۔ غصہ ۔ نوار۔ مٹا۔ دور کر ۔ (1) رہاؤ۔ سال گرام۔ ٹھاکر دی مورتی ۔ دیہہ دس ۔ ہر طرف ۔ لوک پچار۔ لوگوں کو پیرو کار بناتا ہے (2) کھٹ کر ما۔ شاشتروں کی مطاق چھ اعمال۔ دان لینا اور دینا۔ خود پڑھنا اور پڑھانا جگ کرنا اور کراتا ۔ بھاگٹھ گریہہ۔ خوش قسمت۔ دھوان ۔ دولتمند۔ ببھوت۔ دولت ۔ سرمایہ ۔ ایہہ بدھ۔ اس طریقے سے (3) گر سبد کمائے ۔ کلام مرشد پر عمل کرتا ہے ۔ تریگن ۔ تینوں اوصاف ۔ ترقی یا حکومت کی خواہش ۔ طاقت کی خواہش ۔ لالچ زیادہ دولت کمانے کی خواہش ۔ اتری ۔ کم ہونا۔ چتر وید ۔ چاروں وید ۔ ہر نائے ۔ الہٰی نام۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے پنڈت ویدوں کو سمجھ اور غصہ مٹا (1) رہاؤ۔
زبان سے معہ ترجمہ پڑھتا ہے ۔ مگر دلمیں خدا نہیں بستا اور ناہی طرز زندگی پاک ہے ۔ لوگوں کو نصیحت اور سبق دیتا ہے اور پختہ کراتا ہے ۔ مگر جو سبق دوسروں کو دیتا ہے اس پر اپنا عمل نہیں (1) سامنے وشنو کی مورتی ہے ۔ دلمیں بھٹکن ہے ۔ لوگوں کو واجب کام کرتا ہے (2) شاستروں کے بتائے ہوئے چھ کرم اور جوگیوں و الا آنتڑیوں کی صفائی بھی کرتا ہے ۔ تسبیح پھرتا ہے ۔ اور پیے مانگتا ہے مگر اس طرح سے کسی کو کامیابی حاصل نہیں ہوئی (3) پنڈت وہی ہے جو کامل مرشد کی نصیحت و واعظ پر عمل کرتا ہے ۔ تینوں اوصاف والے سرمائے حکومت۔ قوت اور لالچ دل سے نکالتا ہے ۔ اس کے لئے چاروں وید الہٰی نام میں یعنی سچ و حقیقت میں ہیں اے نانک ( اس کی ) اس کے پاؤں پڑو۔

رامکلیِمہلا੫॥
کوٹِبِگھننہیِآۄہِنیرِ॥
انِکمائِیاہےَتاکیِچیرِ॥
انِکپاپتاکےپانیِہار॥
جاکءُمئِیابھئیِکرتار॥੧॥
جِسہِسہائیِہوءِبھگۄان॥
انِکجتناُیاکےَسرنّجام॥੧॥رہاءُ॥
کرتاراکھےَکیِتاکئُنُ॥
کیِریِجیِتوسگلابھۄنُ॥
بیئنّتمہِماتاکیِکیتکبرن॥
بلِبلِجائیِئےَتاکےچرن॥੨॥
تِنہیِکیِیاجپُتپُدھِیانُ॥
انِکپ٘رکارکیِیاتِنِدانُ॥
بھگتُسوئیِکلِمہِپرۄانُ॥
جاکءُٹھاکُرِدیِیامانُ॥੩॥
سادھسنّگِمِلِبھۓپ٘رگاس॥
سہجسوُکھآسنِۄاس॥
پوُرےَستِگُرِدیِیابِساس॥
نانکہوۓداسنِداس॥੪॥੭॥੧੮॥
لفظی معنی:
دگھن۔ رکاوٹیں۔ نیر ۔ نزدیک۔ چیر ۔ مرید۔ پاپ ۔ گناہ ۔ پانیہار۔ پانی ڈہونے والے ۔ میئیا ۔ مہربانی ۔ کر تار۔ کارساز ۔ خدا (1) سہائی ۔ مددگار۔ بھگوان ۔ تقدیر ساز مراد خدا۔ جتن ۔کوشش۔ سبد انجام۔ پوریاں۔ مکمل ہوتی ہے (1) رہاؤ۔ کرتا ۔ کرنے والا۔ کتا ۔ جو کیا ہے ۔ راکھے ۔ محافظ ہو ۔ کیر ۔ کیڑی ۔ انکساری و عاجزی ۔ غرتا۔ بھون۔ علام ۔ مہما۔ عظمت ۔ بلندی ۔ ۔ کتک ۔ کتنی ۔ برن۔ بیان ۔ بل بل ۔ قربان۔(2 ) تن ہی ۔ انہوں نے ۔ جپ تپ ۔ ریاضت و بندگی ۔ انک پرکار۔ بہت سی قسمتوں کا ۔ دان۔ خیرات۔ بھگت۔ عابد۔ پریمی ۔ پروان۔ منظور۔ قبول۔ مان۔ قدر و قیمت (3) سادھ سنگ۔ صحبت ۔ پاکدامن ۔ پر گاس۔ روشنی ۔ سہج سوکھ ۔ روحانی یا ذہنی سکون۔ آسا نواس۔ امیدوں کی جائے رہائش۔ جہاں امیدیں پوری ہوتی ہیں۔ بساس۔ بھروسا۔ داسن داس۔ غلامیوں کا غلام ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جسکا مددگار ہو خود واکار ساز کرتا ر تقدیر ساز بھگوان ۔ اس کی بیشمار کوششیں ہوتی ہیں پوری (1 ) رہاؤ۔ کروڑوں رکاوٹیں ہوتی نہیں در پیش اسے اور دنیاوی دولت خدمتگار ہوجاتی ہے ۔ اس کی بیشمار گناہ اس کے تابع ہوجاتے ہیں ۔ فرمان برداری کرتے ہیں (1) جب کا ر ساز ہی ہو محافظ تو اس کے کئے ہوئے کی کیا جرت ہے ۔ عاجزی و انکساری سارے عالم کو جیت لیتی ہے ۔ اس کارساز کی بھاری بلند ہے ۔ عظمت جو بیان نہیں ہو سکتی کسی بیان کیاجائے ۔ قربان ہو جائیں اس کے قدموں پر (2) اسی نے ہی کی ہے عبادت وریاضت اسی نے ہی کی ہے کئی طرح سے خیرات وہی عابد ور ریاض کار ہوتا ہے ۔ منظور خدا جس کو خدا قدروقیمت کرتاہے بخشتا (3) صحبت پاکدامن سے ذہن ہوتا ہے روشن روحانی سکو ن ملتاہے ۔ا ور امیدیںبر آور ہوتی ہیں کامل مرشد نے دیا ہے بھروسا۔ اے نانک۔ وہ الہٰی خادموں کا خادم ہوجاتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
دوسُندیِجےَکاہوُلوگ॥
جوکماۄنُسوئیِبھوگ॥
آپنکرمآپےہیِبنّدھ॥
آۄنُجاۄنُمائِیادھنّدھ॥੧॥
ایَسیِجانیِسنّتجنیِ॥
پرگاسُبھئِیاپوُرےگُربچنیِ॥੧॥رہاءُ॥
تنُدھنُکلتُمِتھِیابِستھار॥
ہیَۄرگیَۄرچالنہار॥
راجرنّگروُپسبھِکوُر॥
نامبِناہوءِجاسیِدھوُر॥੨॥
بھرمِبھوُلےبادِاہنّکاریِ॥
سنّگِناہیِرےسگلپساریِ॥
سوگہرکھمہِدیہبِردھانیِ॥
ساکتاِۄہیِکرتبِہانیِ॥੩॥
ہرِکانامُانّم٘رِتُکلِماہِ॥
ایہُنِدھاناسادھوُپاہِ॥
نانکگُرُگوۄِدُجِسُتوُٹھا॥
گھٹِگھٹِرمئیِیاتِنہیِڈیِٹھا॥੪॥੮॥੧੯॥
لفظی معنی:
دوس ۔ الزام ۔ کاہو ۔ کسی کو ۔ جو کماون سوئی بھوگ ۔ جیسا کوئی کرتا ہے ویسا ہی پھل پاتا ہے ۔ بندن ۔ بندش۔ غلامی ۔ آون ۔ جان ۔ آواگون۔ تناسخ۔ دھند۔ فضول کام (1) ایسی جانی ۔ ایسی سمجھی ۔ سنت جنی ۔ روحانی رہبر۔ خادمان خدانے ۔ پرگاس۔ روشنی ۔ گربچتی ۔ کلام مرشد (1) رہاؤ۔ متھیا۔ وستھار۔ جھوٹا پھیلاؤ۔ بیور گیور ۔ ہاتھی ۔ گوڑے ۔ چالنہار مٹ جانے والے ۔ راج ۔ حکومت۔ رنگ ۔ پریم۔ روپ ۔ خوبصورت شکل وصورت ۔ کور ۔ جھوٹ۔ نام۔ سچ و حقیقت کے بغیر ۔ دہور ۔ مٹی ۔ خاک (2) بھرم۔ وہم وگمان ۔ بھولے ۔ گمراہ ۔ باد۔ جھگڑے ۔ اہنکاری ۔ مغرور۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ سگل پساری ۔ سارا پھیلاؤ۔ سوگ ۔ پرکھ ۔ غمی ۔ خوشی ۔ بروھانی ۔ بوڑھے ہو جاتے ہیں۔ مراد عمر گذر جاتی ہے ۔ دیہہ۔ جسم۔ ساکت ۔ مادہ پرست۔ منکر۔ او ہی ۔ ایسے ہی ۔ کرت۔ کرتے ہوئے ۔ بہانی گذر جاتی ہے (3) ہر کا نام الہٰی نام سچ و حقیقت آب حیات ہے ۔ کل ماہے ۔ اس زمانے میں۔ ایہہ اندھان۔ یہ خزانہ ۔سا دہو ۔ پاکدامن پاہے پاتا ہے ۔ توٹھا ۔ خوش ہوا۔ رمئیا ۔ خدا۔ ڈیٹھا۔ دیکھا۔ دیدار کیا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس طرح سے روحانی رہبر سنتوں نے سمجھا ہے کامل مرشد کے کلام سے ان کے ذہن روشن ہوگئے (1) رہاؤ۔ کسی پر الزام نہ لگاؤ انسان جیسے اعمال کرتا ہے ویسا اسکا نتیجہ پاتا ہے ۔ اپنے کئے ہوئے اعمال کی مطابق خو دہی ان کا غلام ہوجاتا ہے ۔ دنیاوی دولت کی کار گذاری کی وجہ سے تناسخ میں پڑا رہتا ہے (1) جسمانی ۔ دولت اور عورت یہ جھوٹا پھیلاؤ ہے ۔ یہ ہاتھی گھوڑے مٹ جانے والے ہیں۔ حکومت۔ پیار پریم خوبصورت شکل وصورت ساے جھوٹے مٹ جانے والے ہیں۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر مٹی ہوجائینگے ۔ اور مٹ جائینگے (1) بھٹکن گمراہی جھگڑا اور غرور ہے اے انسان یہ ساتھی نہیں پسارا ہے ۔ اس کی غمی اور خوشی میں جسم بوڑھا اور ناکارہ ہوجاتا ہے ۔ منکر مادہ پرست کی عمر ایسی میں گذ ر جاتی ہے (3 ) اس زمانے میں الہٰی نام ہی آب حیات ہے ۔ جس سے زندگی روحانی اور عرفانی نیک چلن خوش اخلاق ہوجاتی ہے ۔ یہ خزانہ پاکدامن روحانی رہبر کے پاس ہے ۔ اے نانک۔ جس پر خداوند کریم خوش اور مہربان ہوجاتا ہے وہ ہر دلمیں بسے خدا کا دیدار پاتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
پنّچسبدتہپوُرنناد॥
انہدباجےاچرجبِسماد॥
کیلکرہِسنّتہرِلوگ॥
پارب٘رہمپوُرننِرجوگ॥੧॥
سوُکھسہجآننّدبھۄن॥
سادھسنّگِبیَسِگُنھگاۄہِتہروگسوگنہیِجنممرن॥੧॥رہاءُ॥
اوُہاسِمرہِکیۄلنامُ॥
بِرلےپاۄہِاوہُبِس٘رامُ॥
بھوجنُبھاءُکیِرتنآدھارُ॥
نِہچلآسنُبیسُمارُ॥੨॥
ڈِگِنڈولےَکتہوُندھاۄےَ॥
گُرپ٘رسادِکواِہُمہلُپاۄےَ॥
بھ٘رمبھےَموہنمائِیاجال॥
سُنّنسمادھِپ٘ربھوُکِرپال॥੩॥
تاکاانّتُنپاراۄارُ॥
آپےگُپتُآپےپاسارُ॥
جاکےَانّترِہرِہرِسُیادُ॥
کہنُنجائیِنانکبِسمادُ॥੪॥੯॥੨੦॥
لفظی معنی:
پنچ سبد۔ پانچ سازوں کی آواز۔ تار۔ چٹرا۔ دھات ۔ گھڑآ ۔ پھوک ۔ تیہہ ۔ وہاں۔ پورن ناد۔ گھنگور ۔ آزاد۔ انحد ۔ لگاتار۔ اچرج بسماد ۔ حیران کرنے والی ۔ حالت۔ کی ل کریہ ۔ روحاین سکون خوشیوں بھرے کھیل۔ سنت۔ خدا رسیدہ روحانی رہبر۔ پار برہم۔ پار لگا نے والا۔ نرجوگ۔ بیلاگ۔ پاک (1) سکھ ۔ آرام۔ سہج ۔ ذہنی سکون۔ آنند بھون ۔ جائے سکون۔ روگ سوگ۔ بیماری و غمگینی ۔ جنم مرن۔ موت و پدائش (1 ) رہاؤ۔ اوہا۔ وہاں۔ کیول نام۔ صفرف نام سچ و حقیقت ۔ برے کوئی ہی ۔ بسرام۔ بسر اوقار۔ بھاؤ۔ پیار۔ کیرتن ۔ صفت صفلاح ۔ آدھار۔ آسرا۔ نہچل ۔مستقل ۔ آسن۔ ٹھکانہ (2) ڈگ نہ ڈوے ۔ ڈگمگاتا ہے نہیں ۔ پس و پیش نہیں کرتا۔ محل۔ ٹھکانہ ۔ بھرم۔ بھٹکن ۔ بھے ۔ خوف۔ مائیا جال ۔ دولت کی الجھ ن۔ سن سماد۔ ایس سکون جہاں خیالات اور مفکرات کی رو بند رہتی ہے (3) انت۔ آکر۔ پاروار۔ کوئی کنار نہیں۔ گپت ۔ پوشیدہ ۔ پرگٹ۔ ظاہر۔ ہر ہر سود۔ الہٰی لطف ۔ بسمان خیرانی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
آرام و آسائش ذہنی سکون خوشیوں کا مقام ہے جہاں پاکدامن کی صحبت میں رہ کر الہٰی حمدوثناہ کرنا وہاں نہ کوئی بیماری آتی ہے نہ غمگینی او ر نہ تناسخ (1) رہاؤ۔ وہاں پانچوں طرح کے سازیں ۔ گھنگور آواز ہو رہی ہو اور لگا تار ہو رہی ہو ایسی حیران کرنے والی ہوتی ہے ۔ بیلاگ اور ہرجائی خدا کے خادم روحانی رہبر روحانی سکون اور خوشیاں مناتے ہیں (1) اس روحانی زندگی میں صرف الہٰی نام سچ و حقیقت کی ہی یاد ہوتی ہے ۔ کسی کو ہی اسیی روحانی حالات نصیب ہوتے ہیں۔ ایسے حالات میں الہٰی پریم پیار ہی روحانی و جسمانی خوراک ہوتا ہے اور جسمانی طور پر بھی یہی آسرا ہوتا ہے ۔ ایسی روحانی حالات کا ٹھکانہ ڈگمگاتا نہیں اسکا اندازہ نہیں لگائیا جاسکتا (2) ایسی حالت میں نہ ڈگمگاتا ہے نہ بھٹکتا ہے ۔ رحمت مرشد سے کسی کو ہی یہ ٹھکانہ نصیب ہوتا ہے ۔ ایسی حالت میں نہ وہم وگمان نہ دنیاوی دولت کی محبت کا جال ۔ خدا مہربان اور خدا میں ایسا دھیان لگتا ہے ۔ کہ دنیا سے بے خبر ہوجاتا ہے (3) ایسی حالت کا نہ کوئی کنارہ رہتا ہے نہ آخر اسے یہ علام خدا کی ہی شکل وصورت ( میں ) دکھائی دیتی ہے ۔ خدا خود ہی پوشیدہ ہے اور خود ہی ظاہر اے نانک جس کے دل میں اہے الہٰی لطف بیان سے باہر ہے ۔ اس کے عظمت کی حیرانگی والا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
بھیٹتسنّگِپارب٘رہمُچِتِآئِیا॥
سنّگتِکرتسنّتوکھُمنِپائِیا॥
سنّتہچرنماتھامیروپئُت॥
انِکبارسنّتہڈنّڈئُت॥੧॥
اِہُمنُسنّتنکےَبلِہاریِ॥
جاکیِاوٹگہیِسُکھُپائِیاراکھےکِرپادھاریِ॥੧॥رہاءُ॥
سنّتہچرنھدھوءِدھوءِپیِۄا॥
سنّتہدرسُپیکھِپیکھِجیِۄا॥
سنّتہکیِمیرےَمنِآس॥
سنّتہماریِنِرملراسِ॥੨॥
سنّتہماراراکھِیاپڑدا॥
سنّتپ٘رسادِموہِکبہوُنکڑدا॥
سنّتہسنّگُدیِیاکِرپال॥
سنّتسہائیِبھۓدئِیال॥੩॥
سُرتِمتِبُدھِپرگاسُ॥
گہِرگنّبھیِراپارگُنھتاسُ॥
جیِءجنّتسگلےپ٘رتِپال॥
نانکسنّتہدیکھِنِہال॥੪॥੧੦॥੨੧॥
لفظی معنی:
بھیٹت ۔ ملاپ ۔ سنگ۔ ساتھ ۔ پار برہم ۔ پار لگانے والا خدا کی یاد ۔ آئی ۔ سنگت۔ صحبت۔ سنتوکھ ۔ صبر۔ سنتیہہ چرن ۔ روحانی رہروں کی قدموں پر ۔ ماتھا۔ پیشانی ۔ پوت۔ پڑے ۔ ڈنڈوت ۔ سجدہ ۔ سرجھکانا۔ اوٹ۔ آسرا۔ گہی ۔ پکڑی ۔ راکھے ۔ حفاظت کی ۔ (1) رہاؤ۔ درس ۔ دیدار۔ پیکھ پیکھ ۔ دیکھ دیکھ ۔ جیوا ۔ زندگی ملتی ہے ۔ آس۔ امید ۔ نرمل راس۔ پاک سرمایہ (2) پڑوا عزت۔ کڑوا۔ فکر ۔ تشویش۔ سنیتہہ سنگ ۔ روحانی رہبروں کا ساتھ ۔ سہائی ۔ مددگار۔ دیال۔ مہربان ۔ سرت ۔ ہوش ۔ مت بدھ ۔ عقل دانشمند ۔ پر گاس۔ روشنی ۔ گہر گنبھیر ۔ بھاری سنجیدگی ۔ گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ ۔ نہال ۔ خوشی۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا دل قربان ہے ان روحانی رہبر ( سنتوں ) پر ۔ جن کے سہارے روحانی و ذہنی سکون حاصل کیا ہے جن کی کرم و عنایت سے میری حفاظت ہوئی (1) رہاؤ۔ ان کے ملاپ سے خدا کی دل میں یاد آئی اور ان کی صحبت سے صابر ہوا میں سنتوں کی قدمبوسی کرتا ہوں اور بار بار سجدہ کرتاہوں (1) سنتوں کے پاوں دہو دہو پیوں اور ان کے دیدار سے زندگی روحانی واخلاقی ملتی ہے ۔ میرے دلمیں ان کی امداد کا بھروسا ہو گیا ہے ۔ سنت ہمارا پاک سرمایہ ہے (2) سنتوں نے ہماری عزت بچائی ان کی رحمت سے کبھی فکر و تشویش پید ا نیں ہوئی ۔ مہربان رحمان الرحیم خدا نے مجھے سنتوں کی صحبت و قربت عنایت کی جب سنت مددگار ہو جاتے ہیں تو خدا مہربان ہوتا ہے (3) اس سے عقل و ہوش و ذہن روشن ہوجاتا ہے ۔ مراد روحانیت و اخلاقی زندگی کی سمجھ آتی ہے ۔ اے نانک۔ نہایت سنجیدہ بیشمار اوصاف کا خزانہ خدا سارے مخلوقات کا پروردگار خدا ان ستنوں کو دیکھ کر پوری خوشی محسوس کرتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
تیرےَکاجِنگ٘رِہُراجُمالُ॥
تیرےَکاجِنبِکھےَجنّجالُ॥
اِسٹمیِتجانھُسبھچھلےَ॥
ہرِہرِنامُسنّگِتیرےَچلےَ॥੧॥
رامنامگُنھگاءِلےمیِتاہرِسِمرتتیریِلاجرہےَ॥
ہرِسِمرتجمُکچھُنکہےَ॥੧॥رہاءُ॥
بِنُہرِسگلنِرارتھکام॥
سُئِنارُپاماٹیِدام॥
گُرکاسبدُجاپِمنسُکھا॥
ایِہااوُہاتیرواوُجلمُکھا॥੨॥
کرِکرِتھاکےۄڈےۄڈیرے॥
کِنہیِنکیِۓکاجمائِیاپوُرے॥
ہرِہرِنامُجپےَجنُکوءِ॥
تاکیِآساپوُرنہوءِ॥੩॥
ہرِبھگتنکونامُادھارُ॥
سنّتیِجیِتاجنمُاپارُ॥
ہرِسنّتُکرےسوئیِپرۄانھُ॥
نانکداسُتاکےَکُربانھُ॥੪॥੧੧॥੨੨॥
لفظی معنی:
گریہہ ۔ گھر ۔ راج ۔ حکومت۔ مال ۔ دولت ۔ وکھے جنجال ۔ دنیاوی دولت کا مخسمہ یا جال ۔ اسٹ میت ۔ پیارے دوست ۔ عقیدہ کی مطابق دوست۔ چھلے ۔ دہوکا ۔ فریب۔ ہر ہر نام ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت ۔ سنگ ۔ ساتھ (1) رام نام ۔ الہٰی نام ۔ گن ۔ وصف ۔ لاج ۔ عزت۔ آبرو۔ شرم وحیا ۔ سمرت ۔ یاد کرنے پر ۔ جسم۔ الہٰی حاکم (1) رہاؤ۔ سگل ۔ سارے ۔ نرارتھ ۔ بیفائدہ ۔ رپا ۔ چانید ۔ دام۔ نقدی ۔ ایہا ۔ اوہا ۔ یہاں وہاں۔ مراد ہر دو عالموں میں ۔ اُجل مکھا۔ سر خرو (2) وڈے و ڈیرے ۔ آباد اجداد ۔ کاج ۔ جاز ۔ مقصد۔ پورے ۔ حل ۔ نام ۔ سچ و حقیقت ۔ آسا ۔ اُمید ۔ پورن ہوئے ۔ پایہ تکمیل تک پہنچے (3) ہر بھگن۔ الہٰی عابدوں ۔ آدھار۔ ۔ آسرا۔ جنم اپار۔ بیش قیمت زندگی ۔ پروان ۔ منظور ۔ قبول ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دوست الہٰی نام سچ و حقیقت کی صفت صلاح کر الہٰی یاد سے عزت پائیگا۔ الہٰی یاد کرتے ہوئے الہٰی حاکم بھی تیری تحقیق نہیں کریگا (1) رہاؤ۔ یہ گھر یہ حکومت اور سرمایہ تیرے روحانی واخلاقی زندگی میں کام نہ آئیگا۔ دنیاوی دولت کی الجھنیں تجھے اس اخلاق زندگی میں فائدہ نہیں پہنچا سکیں۔ یاد رکھ اے پیارے دوست یہ سارے دہوکا ہیں اور فریب ہیں صرف الہٰی نام ( ہی ) سچ و حقیقت ہی تیرے ساتھ رہیگا (1) بغیر خدا کے سارے کام بیکار اور بیفائدہ ہیں سونا چاندی ۔ نقدی روپیہ پیسا مٹی کے برابر ہے ۔ سبق و کلام مرشد یاد کرتا تو سکون پائیگا ۔ ہر دو عالموںمیں سر خرو ہوگا (2) پہلے ہمارے بزرگ اس دنیاوی دولت کے کار بار کرتے کرتے ماند ہوگئے ۔ کوئی بھی اسے پایہ تکمیل تک نہیں پہنچا سکا ۔ جو کوئی الہٰی سچ و حقیقت کی یادوریاض کرتا ہے ۔ اس کی اُمید پوری ہوتی ہے (3) عابد ان الہٰی کے لئے الہٰی نام سچ و حقیقت ایک آسرا ہوتا ہے ۔ اسی وجہسے روحانی رہبر سنتوں نے بیش قیمت انسانی زندگی کا کھیل جیت لیا ہے ۔ سنت جو کچھ کرتے خدا کو منظور ہوتا ہے ۔ خادم نانک اس پر قربان ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
سِنّچہِدربُدیہِدُکھُلوگ॥
تیرےَکاجِناۄراجوگ॥
کرِاہنّکارُہوءِۄرتہِانّدھ॥
جمکیِجیۄڑیِتوُآگےَبنّدھ॥੧॥
چھاڈِۄِڈانھیِتاتِموُڑے॥
ایِہابسناراتِموُڑے॥
مائِیاکےماتےتےَاُٹھِچلنا॥
راچِرہِئوتوُسنّگِسُپنا॥੧॥رہاءُ॥
بالبِۄستھابارِکُانّدھ॥
بھرِجوبنِلاگادُرگنّدھ॥
ت٘رِتیِءبِۄستھاسِنّچےماءِ॥
بِردھِبھئِیاچھوڈِچلِئوپچھُتاءِ॥੨॥
چِرنّکالپائیِد٘رُلبھدیہ॥
نامبِہوُنھیِہوئیِکھیہ॥
پسوُپریتمُگدھتےبُریِ॥
تِسہِنبوُجھےَجِنِایہسِریِ॥੩॥
سُنھِکرتارگوۄِنّدگوپال॥
دیِندئِیالسداکِرپال॥
تُمہِچھڈاۄہُچھُٹکہِبنّدھ॥
بکھسِمِلاۄہُنانکجگانّدھ॥੪॥੧੨॥੨੩॥
لفظی معنی:
سنچیہہ درب ۔ سرمایہ اکھٹا کرتا ہے ۔ دیہہ دکھ لوگ۔ لوگوں پر طلم و ستم کرکے ۔کاج۔ کام ۔ ادرا۔ دوسروں کی خاطر۔ اہنکار۔ غرور۔ تکبر۔ درتیہہ اندھ ۔ غلط برتاؤ کرتا ہے ۔ جیوڑی ۔ رسی ۔ آگے بندھ ۔ باندھا جائیگا (1) وڈانی تات ۔ بیگانی حسد۔ نشش ۔ مانے ۔ مستی ۔ اُٹھا چلنا ۔ یہاں سے رخصت ہونا ہے ۔ سپنا ۔ خواب (1) رہاؤ۔ بال ووستھا۔ بچپن ۔ بارک ۔ بچہ ۔ اندھ ۔ انجام ۔ بے سمجھ ۔ بھر جوبن۔ جوانی کے عالم میں ۔ لاگادر گندھ ۔ گندھے کاموں میں لگ جاتا ہے ۔ ترتیا ۔ زندگی کے تیسرے دور میں۔ سنپے مائے ۔ دولت ۔ اکھٹی کرتا ہے ۔ بردھ بھیا۔ بورھیا ہوا (2) چرنکال ۔ بھاری دیر بعد۔ درلبھ ۔ نایاب۔ مشکل سے حاصل ہونے والی ۔ نام دہونی ۔ نام یعنی سچ و حقیقت کے بغیر۔ کھیہہ۔ مٹی ۔ پسو ۔ حیوان۔ مگدھ ۔ جاہل۔ پریت۔ بدروح ۔ سبری ۔ پیدا کی دین دیال سدا کرپال رحمان الرحیم ۔ تمیہہ چھڈآ دہو ۔ اے خدا تو ہی چھڈائے ۔ چھغکیہہ بندھ ۔ غلامی یا بندھنوں سے آزادی حاصل ہوتی ہے ۔ بخشش ملا دہو ۔ اپنی کرم و عنایت سے ملاو۔ جگ اندھ ۔ اس اندھیرے وعالم ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان دوسروں سے حسد کرنا چھوڑ دے یہ عالم صرف رات گذارنے کے لئے ہے ۔ اے دنیاوی دولت میں محو ومجذوب انسان تو نے جلدی ہی یہاں سے رخصت ہوجاتا ہے ۔ جب کہ تو خواب میں مشغول ہے ۔ رہاؤ۔ اے نادان دولت اکھٹی کر رہا ہے لوگوں پر ظلم و ستم کرکے یہ تیرے کام نہیں آئیگی یہ دوسروں کے لئے ہی رہ جائیگی ۔ غرور اور تکبر میں ادھار ہوکر لوگوں سے تیرا سلوک ہے ۔ موت کی رہتی میں باندھ کر تجھے آگے لیجائیا جائیگا (1) بچپن ( میں ) بے سمجھی میں گذر جاتی ہے ۔ جوانی کے علام میں انسان گناہوں اور برے کاموں میں گذارتا ہے ۔ زندگی کے تیسرے دور میں دوتل اکٹھی کرتا ہے ۔ آخر کار بوڑھا ہوکر بچھاتا بچھاتے اس جہاں سے رخصت ہوجاتا ہے (2) بڑی دیر بعد یہ نایاب بیش قیمت زندگی میسر ہوتی ہے ۔ مگر نام سچ و حقیقت کے بغیر مٹی میں ملجاتی ہے اور حیوانوں بد روحوں اور جاہلوں سے بھی بری ہے ۔ جس نے یہ پیدا کی ہے جب اسے سمجھتا نہیں (3) اے خدا تو رحمان الرحیم ہے ۔ سن اگر تو انسان کو دنیاوی بندھوں سے آزاد کرائے تو آراد ہو سکتا ہے تو اپنی کرم و عنایت سے ملائے تو ہی ملاپ ہو سکتا ہے ۔ اے نانک ۔ ورنہ یہ عالم ا یک اندھیرا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کرِسنّجوگُبنائیِکاچھِ॥
تِسُسنّگِرہِئواِیاناراچِ॥
پ٘رتِپارےَنِتسارِسمارےَ॥
انّتکیِباراوُٹھِسِدھارےَ॥੧॥
نامبِناسبھُجھوُٹھُپرانیِ॥
گوۄِدبھجنبِنُاۄرسنّگِراتےتےسبھِمائِیاموُٹھُپرانیِ॥੧॥رہاءُ॥
تیِرتھناءِناُترسِمیَلُ॥
کرمدھرمسبھِہئُمےَپھیَلُ॥
لوکپچارےَگتِنہیِہوءِ॥
نامبِہوُنھےچلسہِروءِ॥੨॥
بِنُہرِنامنٹوُٹسِپٹل॥
سودھےساست٘رسِم٘رِتِسگل॥
سونامُجپےَجِسُآپِجپاۓ॥
سگلپھلاسےسوُکھِسماۓ॥੩॥
راکھنہارےراکھہُآپِ॥
سگلسُکھاپ٘ربھتُمرےَہاتھِ॥
جِتُلاۄہِتِتُلاگہسُیامیِ॥
نانکساہِبُانّترجامیِ॥੪॥੧੩॥੨੪॥
لفظی معنی:
سنجوگ ۔ ملاپ ۔ کاچھ ۔ پوشاک۔ مراد جسم۔ تس سنگ۔ اس کے ساتھ ۔ ایانا۔ انجان۔ بے سمجھ ۔ انت کی بار ۔ آخر کار ۔ پر تپارے ۔ پرورش کرتا ہے ۔ سار سمارے ۔ سنبھال کرتا ہے اور سجاتا ہے (1) نام بنا ۔ سچ و حقیقت کے بغیر۔ جھوٹھ پرانی ۔ سبھ جھوٹ ہے ۔ اے دوست ( 1) رہاؤ۔ گو بندبھجن ۔ الہٰی یاد و ریاض ۔ صفت صلح اور سنگ راتے ۔ دوسروں میں محویت ۔ مائیا موٹھ پرانی ۔ اے انسان دنیاوی دولت ایک دہوکا اور فریب ہے (1) رہاؤ۔ تیرتھ نائے ۔ زیارت کرنے سے ۔ کرم دھرم۔ مذہبی راوئتی فرائض کی انجام دہی ۔ ہونمے پھیل ۔ خودی کا پھیلاو۔ لوک پچارے ۔ لوگوں کو پھسلانے سے ۔ پٹل۔ پردہ ۔ سودھے ۔ سمجھے ۔ سگل بھلا۔ سارے پھل (3) راکھنہارے ۔ حفاظت کی ۔ توفیق رکھنے والے ۔ سگل سکھا۔ سارے سکھ ۔ انتر جامی ۔ اندرونی راز جاننے والا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان الہٰی نام سچ ۔ حق و حقیقت کے بغیر سارے دنیا جھوٹی ہے ۔ الہٰی حمدوثناہ کے بغیر دوسروں سے محبت دنیاوی دولت کی محبت میں ٹھگی ہے (1) رہاؤ۔ جیسے درزی ایک پوشاک تیار کرتا ہے اس طرح سے خدا ے یہ جسم بنائیاہے مگر بے سمجھ انسان اسی میں محو ہو گیا ہمیشہ اس کی پرورش کرنے سجانے اور شنگارنے میں مشغول رہتا ہے مگر بوقت اخرت روح اسے چھوڑ کر چلی جاتی ہے (1) زیارت کرنے سے قلب پاک نیں ہوتا۔ مذہبی رسم و رواج محض خودی کا پھیلاؤ ہے ۔ لوگوں کو پیرو کار بنانے باہم خیال بنانے سے روحانی عظمت حاصل نہیں ہوتی ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر اس دنیا سے روتا ہوا رخصت ہو جاتا ہے (2) الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر دنیاوی دولت کی محبت کا پردہ نہیں ٹوٹتا یا پھٹتا ۔ شاستروں و سمرتیوں کا بغور ملاحظہ سے پتہ چلتا ہے کہ یہ پردہ دور نہ ہوگا۔ مگر سچ و حقیقت وہی یاد کرتا اور اپناتا ہے ۔ جسے خدا خود اس میں لگاتا ہے جو سچ و حقیقت الہٰی نام میں دھیان لگاتا ہے وہ آرام و آسائش اور ہر قسم کے پھل پاتا ہے (3) اے سبھ کی حفاظت کی توفیق رکھنے والے خدا تو خود ہی حفاظت کر سارے آرام و آسائش تیرے ہاتھ میں ہیں اے خدا جس میں تو لگاتا ہے ۔ انسان اسی کا م میں لگتا ہے اے نانک۔ خدا سبھ کے دلی راز جانتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
جوکِچھُکرےَسوئیِسُکھُجانا॥
منُاسمجھُسادھسنّگِپتیِیانا॥
ڈولنتےچوُکاٹھہرائِیا॥
ستِماہِلےستِسمائِیا॥੧॥
دوُکھُگئِیاسبھُروگُگئِیا॥
پ٘ربھکیِآگِیامنمہِمانیِمہاپُرکھکاسنّگُبھئِیا॥੧॥رہاءُ॥
سگلپۄِت٘رسربنِرملا॥
جوۄرتاۓسوئیِبھلا॥
جہراکھےَسوئیِمُکتِتھانُ॥
جوجپاۓسوئیِنامُ॥੨॥
اٹھسٹھِتیِرتھجہسادھپگدھرہِ॥
تہبیَکُنّٹھُجہنامُاُچرہِ॥
سرباننّدجبدرسنُپائیِئےَ॥
رامگُنھانِتنِتہرِگائیِئےَ॥੩॥
آپےگھٹِگھٹِرہِیابِیاپِ॥
دئِیالپُرکھپرگٹپرتاپ॥
کپٹکھُلانےبھ٘رمناٹھےدوُرے॥
نانککءُگُربھیٹےپوُرے॥੪॥੧੪॥੨੫॥
لفظی معنی:
سوئی ۔ وہی ۔ اسمجھ ۔ بے سمجھ ۔ سادھ سنگ ۔ صحبت و پاکدامن کے ساتھ سے ۔ پتیانہ ۔ وشواس۔ بھروسا۔ ڈولن ۔ ڈگمانا ۔ چوکا۔ ختم ہوا ۔ ٹھہرائیا ۔ ست۔ سچ ۔ صدیوی سچا خدا ۔ ساچ۔ حقیقت بستی ہے (1 ) دکھ گیا۔ عذاب دور ہوا۔ سبھ روگ گیا۔ ساری بیماریاں مٹیں ۔ آگیا۔ فرمان حکم۔ سن میہہ مانی ۔ فرمانبرداری کی ۔ مہاں پرکھ ۔ بلند عظمت انسان بھئیا۔ ہوا۔ سنگ۔ ساتھ (1) رہاؤ۔ سگل پوتر۔ سارے پاکو مقدس ۔ نرملا۔ پاک۔ درتائے ۔ کرتا ہے ۔ بھلا۔ نیک ۔ اچھا ۔ مکت تھان۔ جائے نجات (2) جیہہ سادھ پگ دھریہہ ۔ جہاں پاکدامن قدم ٹکاتا ہے ۔ بیکنٹھ ۔ بہشت۔ نام اچریہہ۔ جہاں نام کی یادوریاض ہوتی ہے ۔ سرب انند۔ سارے آڑام وآسائش ۔ درسن۔ دیار ۔ رام گنا۔ الہٰی اوصاف (3) بیاپ ۔ بستا ہے ۔ پرگٹ ۔ ظاہر۔ پرتاپ ۔ روحانی طاقت۔ کپٹ۔ کھلانے بھرم ناٹے دور۔ ذہن میں سمجھ آئی اس لئے وہم و گمان یا بھٹکن دور ہوگئی ۔ گر بھیٹے پورے ۔ کامل مرشد سے ہوا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جسے بلند ہستی کا ساتھ حاصل ہوجائے وہ رضائےا لہٰی میں راضی رہتا ہے ۔ اس کے تمام عذاب اور بیماریاں دور ہوجاتی ہیں (1) رہاؤ۔ جو کچھ ہوتا یا کرتا ہے ۔ خدا اسے اچھا سمجھو ۔ بے سمجھ دل جب سادھ یا پاکدامن صحبت میں ایمان لاتا ہے ۔ یا بھروسا کرتا ہے تو ڈگمگانے سے رکتا ہے اور حقیقت میں حقیقت مجذوب ہوجاتی ہے (1) سارا پاک و مقدس ہوتا ہے ۔ جہاں تجھے رکھتا ہے وہی جائے نجات ہے جو یاد ریاض کراتا ہے وہی نام یعنی سچ و حقیقت (2) جہاں پاکدامن قدم ٹکاتا ہے اُسے اڑسٹھ تیرتھوں یا زیارت گاہوں کی جگہ سمجھو۔ جہاں الہٰی نام سچ و حقیقت بیان ہوتا ہے وہی بہشت ہے اور دیدار سے ہر طرح سے تسکین اور ذہنی سکون حاصل ہوتا ہے ۔ الہٰی حمدوثناہ پر روز کرؤ (3) ہر دل میں بستا ہے ۔ خدا اس رحمان الرحیم کی روحانی قوت ظاہر ہے جس سے ذہن کے دروازے کھل گئے ہیں مراد سمجھ آ گئی ہے وہم وگمان مٹ گیا ۔ اے نانک۔ کامل مرشد سے ملاپ ہوگیا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کوٹِجاپتاپبِس٘رام॥
رِدھِبُدھِسِدھِسُرگِیان॥
انِکروُپرنّگبھوگرسےَ॥
گُرمُکھِنامُنِمکھرِدےَۄسےَ॥੧॥
ہرِکےنامکیِۄڈِیائیِ॥
کیِمتِکہنھُنجائیِ॥੧॥رہاءُ॥
سوُربیِردھیِرجمتِپوُرا॥
سہجسمادھِدھُنِگہِرگنّبھیِرا॥
سدامُکتُتاکےپوُرےکام॥
جاکےَرِدےَۄسےَہرِنام॥੨॥
سگلسوُکھآننّداروگ॥
سمدرسیِپوُرننِرجوگ॥
آءِنجاءِڈولےَکتناہیِ॥
جاکےَنامُبسےَمنماہیِ॥੩॥
دیِندئِیالگد਼پالگوۄِنّد॥
گُرمُکھِجپیِئےَاُترےَچِنّد॥
نانککءُگُرِدیِیانامُ॥
سنّتنکیِٹہلسنّتکاکامُ॥੪॥੧੫॥੨੬॥
لفظی معنی:
جاپ تاپ ۔ عبادت وریاضت ۔ بسرام۔ بستے ہیں۔ ردھ ۔ سدھ ۔ کراماتی طاقتیں۔ معجزے ۔ بدھ ۔ عقل و ہوش۔ شعور۔ سر گیان ۔ فرشتوں کی سمجھ ۔ دھ درشٹی ۔ انک ۔ بیشمار ۔ روپ ۔ شکل و صورت ۔ رنگ ۔ پریم پیار۔ بھوگ رسے ۔ تصرف کا لطف۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ مرشد کے ذریعے ۔ نمکھ ۔ آنکھ جھپکتے کے عرصے میں۔ روے ۔ دلمیں (1) ہر کے نام کی وڈیائی ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کی بلندی اور عظمت۔ قیمت۔ قدر و منزلت ۔ سور بیر۔ بہادر۔ دھیرج ۔ تحمل۔ مستقل مزاج ۔ سہج سمادھ۔ روحانی سکون میں محو یا دھیان۔ دھن۔ لگن ۔ مصروفیت ۔ گہر گھنبیر۔ نہایت سنجیدگی ۔ صدا مکت ۔ صدیوی نجات۔ ردے ۔ دلمیں (2) سگل ۔ سارے ۔ اروگ ۔ تندرست۔ سمندر سی ۔ ایک نظر ۔ دیکھنا ۔ تر جوگ ۔ بیلاگ۔ پاک۔ ڈوے ۔ڈگمگائے (3) دین دیال۔ رحمان الرحیم ۔ چند۔ فکر۔ تشویش۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام مراد سچ و حقیقت کی عظمت بیان نہیں ہو سکتی ۔ اس کی قدرومنزلت اور قیمت بیان نہیں ہو سکتی (1) رہاو۔ کروڑوں عبادتیں اور ریاضت اگر بس جائیں۔ بیشمار شکل صورت اور دنیاوی نعمتوں کا لطف لیتا ہو اور اس کی عقل و ہوش اور سرت فرشتوں کی سی ہوجائے اگر کراماتی طاقتیں اور معجزوں کرنے کی قوت حاصل ہو اگر آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے بھی الہٰی نام سچ و حقیقت دلمیں بس جائے تو سارے اس کے برابر ہیں (1) بہادر مستقل اور تحمل مزاج عقلمند خدا سے پوری محبت پیار برائیوں سے پرہیز گار سب کاموں میں کامیاب ہوجاتا ہے ۔ جس کے دلمیں الہٰی نام نام سچ و حقیقت بس جاتی ہے (2) ہر طرح کے آرام و آسائش خوشی و تندرستی برابر نظر و نگاہ بیلاگ نہ ذہنی بھٹکن نہ پاؤں میں لرزش و ڈگمگا ہٹ رہتی ہے ۔ جس کے دلمیں سچ و حقیقت بس جائے (3) رحمان الرحیم خداوند کریم کا نام مرشد کے سیلے سے عبادت و ریاضت کرنے سے فکر و تشویش دور ہوجاتے ہیں۔ نانک کو مرشد نے الہٰی نام سچ و حقیقت عنایت کایا ہے اور روحانی رہبر سنتوں کی خدمت روحانی رہبر کے لئے کام ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
بیِجمنّت٘رُہرِکیِرتنُگاءُ॥
آگےَمِلیِنِتھاۄےتھاءُ॥
گُرپوُرےکیِچرنھیِلاگُ॥
جنمجنمکاسوئِیاجاگُ॥੧॥
ہرِہرِجاپُجپلا॥
گُرکِرپاتےہِردےَۄاسےَبھئُجلُپارِپرلا॥੧॥رہاءُ॥
نامُنِدھانُدھِیاءِمناٹل॥
تاچھوُٹہِمائِیاکےپٹل॥
گُرکاسبدُانّم٘رِترسُپیِءُ॥
تاتیراہوءِنِرملجیِءُ॥੨॥
سودھتسودھتسودھِبیِچارا॥
بِنُہرِبھگتِنہیِچھُٹکارا॥
سوہرِبھجنُسادھکےَسنّگِ॥
منُتنُراپےَہرِکےَرنّگِ॥੩॥
چھوڈِسِیانھپبہُچتُرائیِ॥
منبِنُہرِناۄےَجاءِنکائیِ॥
دئِیادھاریِگوۄِدگد਼سائیِ॥
ہرِہرِنانکٹیکٹِکائیِ॥੪॥੧੬॥੨੭॥
لفظی معنی:
بیج سنتر۔ الہٰی نام ۔ سچ و حقیقت جو روحانیت کا بیج ہے ۔ ہر کیرتن ۔ الہٰی حمدوثناہ ۔ صفت صلاح ۔ نتھاوے تھاؤ۔ جو اسکے لئے ٹھکانہ ہے ۔ جسکا کوئی ٹھکانہ نہیں۔ سویا۔ غفلت اور لا پرواہی کی نیند میں سویا ہوا (1) جپلا ۔ جپیا۔ یادوریاض کی ۔ بھوجل۔ خوفناک سمندر۔ پار پرلا۔ عبور کیا (1) رہاؤ۔ سودھت سودھت ۔ بھاری غور و خوض کے بعد چ ھٹکارا۔ نجات۔ آزادی۔ ذہنی غلامی سے اور برائیوں سے ۔ بھجن ۔ الہٰی عبادت ۔ راپے ۔ متاثر۔ ہر کے رنگ۔ الہٰی پریم پیار میں ۔ سیانپ ۔ دانشمندی ۔ چترائی ۔ چالاکی ۔ ہوشیاری ۔ کائی ۔ جالا۔ میل۔ گوبند گوسائی ۔ خدا (4) نام ندھان۔ نام کا خزانہ ۔ اتل۔ نہ ٹلنے والا۔ مستقل ۔ انمرت۔ رس ۔ اب حیات کا لطف۔ نرمل۔ پاک (2) ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان الہٰی یاد وریاض کر رحمت مرشد سے جس کے دلمیں بسا جائے وہ دنیاوی زندگی کے سمندر سے پار ہوجاتا ہے (1) رہاؤ۔ الہٰی حمدوثناہ کا بنیادی کلام مول منتر گاؤ۔ اس سے جسکا کوئی ٹھکانہ نہیں ملتا ٹھکانہ ملتا ہے ۔ کامل مرشد کے پاوں پڑ مراد نقش قدم پر چل اس غفلت اور لا پروا ئی میں سوئے ہوئے کو بیداری حاصل ہوتی ہے (1) نام کے خزانے سچ و حقیقت میں دھیان لگا اے دل یہ پائیدار اور مستقل ہے ۔ اس سے دنیاوی دولت کے راز افشاں ہوتے ہیں۔ کلام مرشد زندگی کے لئے آب حیات ہے اسکا لطف اٹھاؤں تاکہ تیری زندگی پاک ہوجائے ۔ سیانپ اور دانشمندی و چالاکیاں چھوڑ کر یہ دل الہٰی نام سچو حقیقت کے بغیر دنیاوی دولت کا جالا یا تاثر ختم نہیں ہوتا جس پر الہٰی کرم و عنایت ہوتی ہے ۔ اے نانک خدا کو وہ اپنا آسرا بناتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
سنّتکےَسنّگِرامرنّگکیل॥
آگےَجمسِءُہوءِنمیل॥
اہنّبُدھِکابھئِیابِناس॥
دُرمتِہوئیِسگلیِناس॥੧॥
رامنامگُنھگاءِپنّڈِت॥
کرمکاںڈاہنّکارُنکاجےَکُسلسیتیِگھرِجاہِپنّڈِت॥੧॥رہاءُ॥
ہرِکاجسُنِدھِلیِیالابھ॥
پوُرنبھۓمنورتھسابھ॥
دُکھُناٹھاسُکھُگھرمہِآئِیا॥
سنّتپ٘رسادِکملُبِگسائِیا॥੨॥
نامرتنُجِنِپائِیادانُ॥
تِسُجنہوۓسگلنِدھان॥
سنّتوکھُآئِیامنِپوُراپاءِ॥
پھِرِپھِرِماگنکاہےجاءِ॥੩॥
ہرِکیِکتھاسُنتپۄِت॥
جِہۄابکتپائیِگتِمتِ॥
سوپرۄانھُجِسُرِدےَۄسائیِ॥
نانکتےجناوُتمبھائیِ॥੪॥੧੭॥੨੮॥
لفظی معنی:
سنت کے سنگ ۔ سنت کے صحبت میں یا ساتھ ۔ رام رنگ۔ الہٰی محبت یا پیار میں۔ کیل ۔کھیل۔ جم۔ فرشتہ موت ۔ میل ۔ ملاپ ۔ اہنبدھ ۔ مغروری ۔ بھئیا۔ ہوا۔ بناس۔ فناہ ۔ مٹا۔ درمت ۔ بد عقلی ۔ سگلی ناس۔ ساری مٹ گئی (1) رام نام۔ الہٰی نام ۔ سچ و حقیقت۔ ۔ پنڈت۔ علام علم ۔ کرم کانڈ۔ مذہبی رسوم کی ادائیگی ۔ اہنکار۔ غرور۔ کسل سیتی ۔ بخوشی (1) رہاؤ۔ ہر کاجس ۔ الہٰی حمدو۔ تعریف۔ لابھ ۔ فائدہ ۔ ندھ ۔ خزانہ ۔ متورتھ ۔ مقصد۔ سابھ ۔ سارے ۔ دکھ ناٹھا۔ عذاب مٹا ۔ گھر ۔ میہہ۔ دلمیں۔ سنت ۔ پرساد۔ روحانی رہبر کی رحمت سے ۔ کمل و گسائیا۔ دل کا کونل کھلا (2) نام رتن۔ قیمتی نام۔ دان۔ خیرات ۔ سگل ندھان۔ سارے خزانے ۔ سنتوکھ ۔ صبر۔ پور۔ کامل۔ ماگن کاہے جائے ۔ مانگتے کیوں جاتا ہے ۔ سنت۔ سننے سے ۔ پوت۔ پاک ۔جہوا۔ زبان۔ بکت۔ بولتے ہوئے ۔ گت مت ۔ گت ۔ حالت۔ مت ۔ عقل۔ پروان۔ منظور۔ قبول۔ ردے دسائی ۔ جس نے دلمیں بسائیا ۔ اُتم۔ بلند عظمت۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے پنڈت الہٰی حمدوثناہ کیا کر مذہبی رسومات کی ادائیگی کا فخر و غرور نہ کرنا چھوڑ دے اس سے منزل مقصود پر پہنچ جائیگا (1) رہاؤ۔ روحانی رہبر کی صحبت میں رہ کر الہٰی پریم پیار کا کھیل کھیل ۔ تاکہ آئندہ فرشتہ موت سے واسطہ نہ پڑے ۔ جب خود پسندی مٹ جائیگی جاتی ہے ۔ تو بد عقلی ختم ہوجاتی ہے (1) جس نے الہٰی صفت صلاح کا خزانہ پا لیا اس کے سارے مقصد حل ہوگئے ۔ عذاب مٹ گئے ۔ آرام و آسائش حاصل ہوا ۔ رحمت مرشد سے دل کا پھول کھل گیا (2) اے انسان جس نے تجھے الہٰی نام سچ و حقیقت خیرات میں دیدیا سارے خزانے اسی کے ہوگئے ۔ کامل خدا کو پاکر صابر ہوگئے ۔ تو پھر کیوں بھیک مانگتے جاتے ہیں (3) اے نانک۔ الہٰی صفت صلاح کی باتیں سننے سے زندگی پاک ہوجاتی ہے ۔ زبان سے بیان کرنے سے بلند روحانی حالت اور دانش حاصل ہوتی ہے ۔ وہ قبول و منظور ہوجاتا ہے ۔ جس کے دلمیں بس جاتا ہے خدا وہ بلند عظمت ہوجاتے ہیں۔

رامکلیِمہلا੫॥
گہُکرِپکریِنآئیِہاتھِ॥
پ٘ریِتِکریِچالیِنہیِساتھِ॥
کہُنانکجءُتِیاگِدئیِ॥
تباوہچرنھیِآءِپئیِ॥੧॥
سُنھِسنّتہُنِرملبیِچار॥
رامنامبِنُگتِنہیِکائیِگُرُپوُرابھیٹتاُدھار॥੧॥رہاءُ॥
جباُسکءُکوئیِدیۄےَمانُ॥
تبآپساوُپرِرکھےَگُمانُ॥
جباُسکءُکوئیِمنِپرہرےَ॥
تباوہسیۄکِسیۄاکرےَ॥੨॥
مُکھِبیراۄےَانّتِٹھگاۄےَ॥
اِکتُٹھئُراوہکہیِنسماۄےَ॥
اُنِموہےبہُتےب٘رہمنّڈ॥
رامجنیِکیِنیِکھنّڈکھنّڈ॥੩॥
جوماگےَسوبھوُکھارہےَ॥
اِسُسنّگِراچےَسُکچھوُنلہےَ॥
اِسہِتِیاگِستسنّگتِکرےَ॥
ۄڈبھاگیِنانکاوہُترےَ॥੪॥੧੮॥੨੯॥
لفظی معنی:
گہہ ک پکڑی ۔ جب پکڑنے کی کوشش کی ۔ تیاگ۔ چھوڑ دی ۔ چرنی ۔ لاگ۔ پاوںپڑی (1) نرمل وچار۔ پا ک خیال۔ گت۔ حالت۔ گر پوری بھیٹت ادھار۔ کامل مرشد کے ملاپ سے آسرا ملتا ہے ۔ رہاؤ۔ مان ۔ وقار۔ آداب۔ تعظیم۔ گمان ۔ غرور۔ من پر ہرے ۔ دل سے بھلادے ۔ سیوک سیوا کرے ۔ تو خدمتگار ہوکر خدمت کرتی ہے (2) سکھ بیراوے ۔ زبان سے بچاکاریت ہے ۔ انت ٹھکاوے ۔ آخر دہوکا دیتی ہے ۔ ٹھور ۔ ٹھکانے ۔ برہمنڈ۔ بہتی دنیا۔ رام جتی ۔ الہٰی خدمتگار۔ کھنڈ کھنڈ۔ ٹکڑے ٹکڑے (3) سنگ راچے ۔ اس کے ساتھ رشتہ بنائے ۔ ست سنگت۔ صحبت پارسائیاں ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبر ( سنتہو) پاک خیالات سنو جس سے زندگی پاک ہوجاتی ہے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر بلند ترین روحانی پاک زندگی نہیں ہو سکتی مگر کامل مرشد کے ملاپ سے یہ سرا اور کامیاب زندگی بنتی ہے اور کامیابی حاصل ہوتی ہے ۔ بھنور تمام پکڑنے کی کوشش کی تو ہاتھ نہ آئی ۔ پیار سے بھی ساتھ نہ دیا اے نانک بتادے جب چھوڑ دی تو پاوں پڑی قدمبوسی کرنے لگی (1) جب اسکا کوئی آداب بجا لاتا ہے تو وہ غرور کرتی ہے ۔ جب کوئی اسے دل سے بھلا دیتا ہے ۔ تب خدمتگار ہوکر خدمت کرتی ہے (2 ) زبان سے چاپلوسی کرتی ہے ۔ مگر آخر دہوکا دیتی ہے فریب کرتی ہے ۔ ایک جگہ ٹھکانہ نہیں بناتی ۔ اس نے ایک علام کو اپنی محبت میں گرفتار کر رکھا ہے ۔ مگر خادمان خدا الہٰی خدمتگاروں نے اس کی محبت کے ٹکڑے ٹکڑے کے رکھے ہیں (3) جو دنیاوی دولت مانگتاہے اس کی بھوک نہیں مٹتی ہمیشہ بھوکا رہتا ہے ۔ جو سے محبت کرتا ہے ۔ وہ روحانی واخلاقی طور پر ندار و ہوجاتا ہے ۔ اس سے تیاگ کرکے اور پرہیز کرکے صحبت و قربت پاسائیاں و عارفان الہٰی کرتا ہے ۔ اے نانک وہ بلند قسمت ہے اور روحانی واخلاقی طور پر اپنی زندگی کامیاب بنا لیتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
آتمرامُسربمہِپیکھُ॥
پوُرنپوُرِرہِیاپ٘ربھایکُ॥
رتنُامولُرِدےمہِجانُ॥
اپنیِۄستُتوُآپِپچھانُ॥੧॥
پیِانّم٘رِتُسنّتنپرسادِ॥
ۄڈےبھاگہوۄہِتءُپائیِئےَبِنُجِہۄاکِیاجانھےَسُیادُ॥੧॥رہاءُ॥
اٹھدسبیدسُنےکہڈورا॥
کوٹِپ٘رگاسندِسےَانّدھیرا॥
پسوُپریِتِگھاسسنّگِرچےَ॥
جِسُنہیِبُجھاۄےَسوکِتُبِدھِبُجھےَ॥੨॥
جاننھہارُرہِیاپ٘ربھُجانِ॥
اوتِپوتِبھگتنسنّگانِ॥
بِگسِبِگسِاپُناپ٘ربھُگاۄہِ॥
نانکتِنجمنیڑِنآۄہِ॥੩॥੧੯॥੩੦॥
رامکلیِمہلا੫॥
دیِنونامُکیِئوپۄِتُ॥
ہرِدھنُراسِنِراساِہبِتُ॥
کاٹیِبنّدھِہرِسیۄالاۓ॥
ہرِہرِبھگتِرامگُنھگاۓ॥੧॥
باجےانہدباجا॥
رسکِرسکِگُنھگاۄہِہرِجناپنےَگُردیۄِنِۄاجا॥੧॥رہاءُ॥
آءِبنِئوپوُربلابھاگُ॥
جنمجنمکاسوئِیاجاگُ॥
گئیِگِلانِسادھکےَسنّگِ॥
منُتنُراتوہرِکےَرنّگِ॥੨॥
راکھےراکھنہاردئِیال॥
ناکِچھُسیۄاناکِچھُگھال॥
کرِکِرپاپ٘ربھِکیِنیِدئِیا॥
بوُڈتدُکھمہِکاڈھِلئِیا॥੩॥
سُنھِسُنھِاُپجِئومنمہِچاءُ॥
آٹھپہرہرِکےگُنھگاءُ॥
گاۄتگاۄتپرمگتِپائیِ॥
گُرپ٘رسادِنانکلِۄلائیِ॥੪॥੨੦॥੩੧॥
لفظی معنی:
آتم رام ۔ خدا۔ سرب۔ میہہ۔ سبھ میں۔ پیکھ ۔ دیکھ ۔ پورہیا۔ سبھ میں بستا ہے ۔ رتن امول۔ قیمتی ہیرا نام ۔ اپنی دست اپنی اشیا (1) سنتن پر ساد۔ رحمت روحانی رہبر سے ۔ بن جہو ۔ بغیر زبان ۔ سآد۔ لطف۔ لذت (1) رہاؤ ۔ اٹھ دس ۔ اٹھارہ پران۔ ڈرور۔ ( پاگل ) بولا۔ بہرا۔ کوٹ پر گاس۔ بیشمار ۔ روشنی ۔ نہ وسے اندھیرا ۔ جسے دکھائی نہ دے تو اندھا ہے ۔ پسو۔ حیوان۔ پریت۔ پیار ۔کت بدھ۔ کس طریقے سے ۔ بجھے ۔ سمجھے (2) جاننہار ۔ جاننے کی توفیق رکھنے والا۔ اوت پوت۔ بنا ہوا ۔ اور پروائیا ہوا تانے پیٹنے کی طرح۔ سنگال ۔ سات۔ وگس وگس۔ خوش ہو ہوکر ۔ اپنا پربھ گاویہہ۔ اپنے خدا کی حمدوثناہ کرتے ہیں۔ جسم ۔ فرشتہ ۔ موت
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان رحمت رہبر ان روحانیت ( سنتو) سے آب حیات پی جس سے زندگی روحانی واخلاقی لحاظ سے بہتر ہوجاتی ہے ۔ جو بلند قسمت سے ملتی ہے بغیر زبان اسکا لطف نہیں لیا جا سکتا نہ سمجھ آتی ہے (1) رہاؤ۔ اس بات کا خیال کر اور دیکھ کہ خدا سب میں بستا ہے اور مکمل طور پر ہر ایک میں واحد خدا موجود ہے اس بات کو سمجھ لے کہ ایک قیمتی ہیرا ( الہٰی نام ) تیرے دمیں بستا ہے ۔ اس اپنی چیز کی پہچان کر (1) اٹھارہ پران اور چاروں وید ایک بہر ہ انسان کیسے سن سکتا ہے اور اندھا کروڑوں روشنیاں ہونے کے باوجود نہیں دیکھ سکتا اس کے لئے اندھیرا ہی اندھیرا ہے ۔ حیوان کا پیار گھاس سے ہوتا ہے جسے خدا نے سمجھ ہی نہیں بخشی وہ کیسے سمجھ سکتا ہے (2) جاننے سمجھنے کی توفیق رکھنے والا خدا جانتا ہے ۔ اور وہ عابدوں ریاض کاروں خدمتگاروں کا ساتھی ہے اور تانے پیٹے کی طرح ان کے ساتھ ہے ۔ اے نانک۔ جو شخص بخوشی تمام اپنے خدا کی حمدوثناہ کرتے ہین فرشتہ موت ان کے نزدیک نہیں پھٹکتا ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کئُڈیِبدلےَتِیاگےَرتنُ॥
چھوڈِجاءِتاہوُکاجتنُ॥
سوسنّچےَجوہوچھیِبات॥
مائِیاموہِیاٹیڈھءُجات॥੧॥
ابھاگےتےَلاجناہیِ॥
سُکھساگرپوُرنپرمیسرُہرِنچیتِئومنماہیِ॥੧॥رہاءُ॥
انّم٘رِتُکئُرابِکھِیامیِٹھیِ॥
ساکتکیِبِدھِنیَنہُڈیِٹھیِ॥
کوُڑِکپٹِاہنّکارِریِجھانا॥
نامُسُنتجنُبِچھوُءڈسانا॥੨॥
مائِیاکارنھِسدہیِجھوُرےَ॥
منِمُکھِکبہِناُستتِکرےَ॥
نِربھءُنِرنّکارداتارُ॥
تِسُسِءُپ٘ریِتِنکرےَگۄارُ॥੩॥
سبھساہاسِرِساچاساہُ॥
ۄیمُہتاجُپوُراپاتِساہُ॥
موہمگنلپٹِئوبھ٘رمگِرہ॥
نانکتریِئےَتیریِمِہر॥੪॥੨੧॥੩੨॥
لفظی معنی:
دینو ۔ دیا ۔ پوت ۔ پاک ۔ راس۔ سرمایہ ۔ نراس۔ بے امید ۔ بت ۔د ولت۔ بندھ ۔ غلامی (1) بابے ۔ بجتا ہے ۔ انحد۔ لگاتار ۔ رسک رسک ۔ بالطف ۔ گن گاوہو ۔ حمدوثناہ کرؤ۔ گور دیو ۔ مرشد دیتا ۔ نواجا ۔ نوارز ۔ کرم وعنایت (1) رہاؤ۔ پور بلا ۔ پچھلے ۔ بھاگ۔ قسمت۔ سوئیا۔ غفلت۔ یا لاپرواہی کی نندا ۔ جاگ۔ بیداری ۔ گلان ۔ نفرت ۔ سادھ کے سنگ۔ صحبت و قربت پاکدامن۔ رانو۔ محو۔ ہر کے رنگ۔ الہٰی محبت پریم میں (2) راکھنہار۔ حفاظت کی توفیق رکھنے والا۔ سیوا۔ خدمت ۔ گھال۔ محنت و مشقت ۔ دیا ۔ مہربانی ۔ بودت۔ ڈوبتے (3) اپجیو ۔ پیدار ہوا۔ چاؤ۔ خوشی۔ آٹح پہر ۔ ہر وقت۔ پرم گت۔ بلند روحانی و اخلاقی حالت۔ تو ۔ لگ ۔
ترجمہ معہ تشریح: :
جو اپنے مرشد کے نوازش سے الہٰی حمدوثناہ کرتے ہیں اور اسکا لطف لیتے ہیں ان کے ذہن میں روحانی سنگیت ہوتے رہتے ہیں۔ (1) رہاؤ۔ جسے خدا نے اپنے نام سچ و حقیقت کی خیرات کی وہ پاک ہو گیا خدا ہی اس کے لئے دولت اور پونجی ہے وہ دنیاوی دولت سے طارق رہتا ہے ۔ غلامی اور بندش ختم کرکے خدمت خدا میں لگاتا ہے اور وہ الہٰی حمدوثناہ کرتا ہے (1) اس سے پہلے درینہ کئے دیرینہ اعمال کا صلہ ملنے کا سبب بنتا ہے اور درینہ کی ہوئی غفلت سے بیداری ملتی ہے ۔ صحبت پاکدامن کی وجہ سے نفرت مٹ جاتی ہےا ور دل و جان میں الہٰی پریم پیار میں محویت ہوجاتی ہے (2) حفاظت کی توفیق رکھنے والے مہربان نے حفاظت کی ۔ جبکہ نہ کوئی خدمت نہ کوئی محنت و مشقت اس نے اپنی کرم و عنایت سے مہربانی کی عذاب میں ڈوبتے ہوئے کو بچائیا (3) سن سن کر دلمیں خوشیاں پیدا ہوئیں۔ ہر وقت عبادت اور حمدوثناہ کرؤ۔ الہٰی حمدو ثناہ بلند روحانی بلند رتبے اور روحانی زندگی ملتی ہے ۔ اے نانک رحمت مرشد سے رشتہ اور محبت بنائی ۔

رامکلیِمہلا੫॥
ریَنھِدِنسُجپءُہرِناءُ॥
آگےَدرگہپاۄءُتھاءُ॥
سدااننّدُنہوۄیِسوگُ॥
کبہوُنبِیاپےَہئُمےَروگُ॥੧॥
کھوجہُسنّتہُہرِب٘رہمگِیانیِ॥
بِسمنبِسمبھۓبِسماداپرمگتِپاۄہِہرِسِمرِپرانیِ॥੧॥رہاءُ॥
گنِمِنِدیکھہُسگلبیِچارِ॥
نامبِناکوسکےَنتارِ॥
سگلاُپاۄنچالہِسنّگِ॥
بھۄجلُتریِئےَپ٘ربھکےَرنّگِ॥੨॥
دیہیِدھوءِناُترےَمیَلُ॥
ہئُمےَبِیاپےَدُبِدھاپھیَلُ॥
ہرِہرِائُکھدھُجوجنُکھاءِ॥
تاکاروگُسگلمِٹِجاءِ॥੩॥
کرِکِرپاپارب٘رہمدئِیال॥
منتےکبہُنبِسرُگد਼پال॥
تیرےداسکیِہوۄادھوُرِ॥
نانککیِپ٘ربھسردھاپوُرِ॥੪॥੨੨॥੩੩॥
لفظی معنی:
رین ونس۔ روز و شب ۔ دن رات۔ ہر ناؤ۔ الہٰی نام۔ سچ و حقیقت۔ درگیہہ۔ دربار ۔ عدالت۔ تھاؤ۔ تھکانہ ۔ انند۔ خوشی بھرا سکون۔ سوگ۔ افسوس۔ کبہو ۔ کبھی ۔ ہومے روگ۔ خودی کی بیماری (1) کھوجہو ۔ تحقیق ۔ پڑتال ۔ ڈہونڈو ۔ تلاش ۔ سنتہو۔ روحانی رہبرو ۔ برہم گیانی ۔ خدا کو جاننے اور سمجھنے والا۔ بسمن۔ حیرانگی ۔ بسماد ۔ حیرانی پیدا کرنے کے آچار۔ پرم گت۔ بلند روحانی واخلاقی رتبہ۔ سمرپرانی ۔ اے انسانیاد کر (1) رہاؤ۔ گن من۔ سوچ سمجھ ۔ سگل وچار۔ ہر طرح سوچ سمجھ کر ۔ تار۔ کامیاب۔ اپاد۔ کوشش۔ تردو ۔ جہد۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ بھوجل۔ دنیاوی زندگی کو خوفناک سمندر سے مشابہ کیا ہے ۔ (2) دیہی دہوئے ۔ غسل کرنے سے ۔ میل ۔ ناپاکیزگی ۔ ہومے بیاپے ۔ خودی بستی ہے ۔ دبدھا ۔ دوچتی ۔ دوہرے خیال۔ پھیل پھیلاؤ ۔ سارا۔ اوکھد ۔ دوائی۔ سگل روگ ۔ ساری بیماری (3) پار برہم ۔ پار لگانے والے خدا۔ وسر ۔ بھول۔ دہور۔ خاک۔ سردا ۔ یقین ۔ اعتماد ۔ بھروسا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے جن شناسو الہٰی علم کے جاننے والوں روحانی رہبر عارفو اور سنتو خدا کی جستجو کرتے رہو۔ الہٰی یادو ریاض سے بھاری حیران کرنے والی حالت پاؤ گے ۔ اور روحانیت کا بلند رتبہ پا لوگے (1) رہاؤ۔ روز و شب الہٰی نام سچ و حقیقت کو یاد کرؤ تکاہد ربار الہٰی میں ٹھکانہ پا سکو اور خوشیوں بھرا سکون پاو اور کبھی فکر و تشویش نہیں رہتی نہ کبھی خودی اپنا تاثر بناتی ہے (1) ہر طرح کے خیالات اور سوچ وچار سےا اندازہ لگاؤ کو الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر اس دنیاوی سمندر سے عبور نہیں کرا سکتا ۔ دوسری کوئی کوشش ساتھ نہیں دیتی الہٰی پریم پیار سے ہی یہ دنیاوی زندگی کا ہولناک سمندر عبور ہو سکتا ہے (2) غسل کرنے سے ناپاکیزگی دور نہیں ہوتی ۔ بلکہ خودی اپنا تاثر بناتی ہے ۔ جو شخص الہٰی نام کی دوائی استعمال کرتا ہے اس کی تمام ذہنی بیماریاں دور ہوجاتی ہے (3) اے رحمان الرحیم کرم و عنایت فرما کر تو میرےد ل سے بھی نہ بھولے اور میں خادموں کے قدموں کی دہول بنا رہوں اے خدا ۔ نانک کی یہ عقیدت مندی پوری کر ۔

رامکلیِمہلا੫॥
تیریِسرنھِپوُرےگُردیۄ॥
تُدھُبِنُدوُجاناہیِکوءِ॥
توُسمرتھُپوُرنپارب٘رہمُ॥
سودھِیاۓپوُراجِسُکرمُ॥੧॥
ترنھتارنھپ٘ربھتیروناءُ॥
ایکاسرنھِگہیِمنمیرےتُدھُبِنُدوُجاناہیِٹھاءُ॥੧॥رہاءُ॥
جپِجپِجیِۄاتیراناءُ॥
آگےَدرگہپاۄءُٹھاءُ॥
دوُکھُانّدھیرامنتےجاءِ॥
دُرمتِبِنسےَراچےَہرِناءِ॥੨॥
چرنکملسِءُلاگیِپ٘ریِتِ॥
گُرپوُرےکیِنِرملریِتِ॥
بھءُبھاگانِربھءُمنِبسےَ॥
انّم٘رِتنامُرسنانِتجپےَ॥੩॥
کوٹِجنمکےکاٹےپھاہے॥
پائِیالابھُسچادھنُلاہے॥
توٹِنآۄےَاکھُٹبھنّڈار॥
نانکبھگتسوہہِہرِدُیار॥੪॥੨੩॥੩੪॥
لفظی معنی:
پورے گردیو ۔ کامل مرشد دیوتے ۔ سرن ۔پناہ۔ سمرتھ۔ با توفیق ۔ دھیائے ۔ دھیان لگاتا ہے ۔ کرم ۔ نصیب۔ قسمت ۔ بخشش (1) ترن۔ بیٹری ۔ تارن ۔ عبور کرنے والا۔ کامیاب بنانے والا۔ ناو۔ سچ و حقیقت۔ ٹھاؤ۔ ٹھکانہ ۔ (1) رہاؤ۔ سرن ۔ پناہ۔ گہی ۔ پکڑی۔ درگیہہ۔ عدالت الہٰی دوکھ ۔ عذاب۔ اندھیرا ۔ نا سمجھی ۔ جہالت۔ درمت۔ بد عقلی ۔ ونسے ۔ مٹے ۔ راچے ۔ محو (2) پریت۔ پیار۔ نرمل ریت۔ پاک رسم و رواج ۔ بھوبھاگا ۔ خوف مٹا ۔ نربھو۔ بیخوف۔ انمرت نام۔ آب حیات نام جس سے زندگی روحانی بن جاتی ہے ۔ سچ و حقیقت ۔ رسنا۔ زبان (3) کاٹے پھاہے ۔ پھندے کائے ۔ لابھ ۔ منافع۔ سچا دھن۔ سچا سرمایہ ۔ توٹ ۔ کمی ۔ اکھٹ۔ نہ ختم ہونے والا۔ بھنڈار۔ خزانہ ۔ سوہے ۔ شہرت پاتا ہے ۔ ہردوآر ۔ خدا کے در پر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تیرا نام سچ و حقیقت اس زندگی کو اس زندگی کے سمندر کو عبور کرنے کے لئے ایک بحری جہاز ہے ۔ میرے دل واحد تیری پناہ لی ہے ۔ تیرے بغیر میرا دوسر کوئی ٹھکانہ نہیں (1) رہاؤ۔ اے مکمل پورے فرشتے یا دیوتے تیرے بغیر کوئی دوسری ہستی نہیں تو مکمل طور پر کامل خدا ہے ۔ تجھ میں وہی دھیان دے سکتا ہے جس پر تیری پوری کرم و عنایت ہو (1) اے خدا تیرے نام کی یادو ریاض سے روحانی زندگی حاصل ہوتی ہے اور بارگاہ الہٰی میں ٹھکانہ ملتا ہے ۔ عذاب کمع قلی و جہالت دل سے دور ہوتا ہے ۔ بد عقلی ختم ہوتی ہے اور الہٰی نام سے رغبت اور رجوع ہوجاتا ہے (2) مقدس قدموس سے محبت ہوجاتی ہے ۔کامل مرشد کے زندگی گزارنے کے طریقے رسم و رواج اور راہیں پاک ہوتی ہے ۔ خوف مٹتا ہے بیخوفی دلمیں بستی ہے ۔ جو آب حیات نام سچ و حقیقت کو زبان سے ہر روز یاد وریاض کرتا ہے (3) دیرینہ زندگی کے پھندے اور جال کاٹ دیتا ہے ۔ وہ صدیوی رہنے والا منافع نامی کما لیتے ہیں۔ جس میں کبھی کبھی واقع نہیں ہوتی جو کبھی نا ختم ہونے والا خزانہ ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
رتنجۄیہرنام॥
ستُسنّتوکھُگِیان॥
سوُکھسہجدئِیاکاپوتا॥
ہرِبھگتاہۄالےَہوتا॥੧॥
میرےرامکوبھنّڈارُ॥
کھاتکھرچِکچھُتوٹِنآۄےَانّتُنہیِہرِپاراۄارُ॥੧॥رہاءُ॥
کیِرتنُنِرمولکُہیِرا॥
آننّدگُنھیِگہیِرا॥
انہدبانھیِپوُنّجیِ॥
سنّتنہتھِراکھیِکوُنّجیِ॥੨॥
سُنّنسمادھِگُپھاتہآسنُ॥
کیۄلب٘رہمپوُرنتہباسنُ॥
بھگتسنّگِپ٘ربھُگوسٹِکرت॥
تہہرکھ’ن’سوگنجنمنمرت॥੩॥
کرِکِرپاجِسُآپِدِۄائِیا॥
سادھسنّگِتِنِہرِدھنُپائِیا॥
دئِیالپُرکھنانکارداسِ॥
ہرِمیریِۄرتنھِہرِمیریِراسِ॥੪॥੨੪॥੩੫॥
لفظی معنی:
رتن جو یہر ۔ قیمتی ہیرے جواہرات ۔ نام ۔ سچ و حقیقت۔ ست ۔ سچ ۔ سنتوکھ ۔ صبر۔ گیان ۔ علم۔ سوکھ سہج ۔ روحانی وذہنی سکون ۔ پوتا ۔ خزانہ (1) بھنڈار۔ خزانہ ۔ توٹ۔ کمی ۔ انت ۔ شمار ۔ پاراوار ۔ وسعت ۔ (1) رہاؤ۔ نرملوک ۔ جس کی قیمت مقرر نہ کی جا سکے ۔ گنی کہیرا۔ بھاری کہرے سنجیدہ اوصاف والا۔ انحد۔ لگاتار ۔ ان آوت۔ بے آواز۔ بانی ۔ کلام۔ پونجی ۔ سرمیاہ ۔ کرنجی (2) راز۔ گوسٹ۔ گفتار ۔ بات چیت۔ ہرکھ ۔ خوشی۔ سوگ۔ غمی ۔ سن سمادھ گچھا تیہہ آسن۔ ذہن نشین ۔ ذہن میں خیالات کی ایسی خاموشی کہ ذہن میں خیالات کی کوئی حرکت واقع نہ ہو ۔ کیول ۔ صرف۔ برہم۔ خدا۔ پورن ۔ مکمل طور پر ۔ باسن ۔ بستا ہے ۔ گوشٹ۔ مشورہ ۔ بتبادلہ خیالات۔ بات چیت۔ گفتار ۔ جنم نہ مرت نہ موت و پیدائش (3) دوائیا۔ دلائیا۔ سادھ سنگ۔ صحبت پاکدامن ۔ ہر دھن۔ الہٰی دولت ۔ دیال پرکھ ۔ رحمان الرحیم ۔ ارداس۔ عرض۔ درتن۔ درتاوا۔ رشتہ دار ۔ راس۔ پونجی ۔ سرمایہ ۔
ترجمہ معہ تشریح::
خدا کا خزانہ ایسا ہے کہ اسے کھانے سے اور خرچتے اسے اسمیں کوئی کمی واقع نہیں ہوتی ۔ اور اتنا زیادہ اور وسیع کہ اسکا کوئی کنارہ نہیں (1) رہاؤ۔ الہٰی نام نہایت قیمتی ہیروں جواہرات کی مانند ہے ۔ سچ صبر۔ علم و سمجھ آرام و آسائش روحانی سکون اور مہربانیوں کا خزانہ ہے ۔ جو عابدان الہٰی کے حوالے کیا ہوا ہے (1) الہٰی حمدوثناہ ایک قیمتی ہیرا ہے جس کی قیمت طے نہیں کیجاسکتی ۔ بیشمار اوصاف کا مالک لگاتار بے آواز کلام کا سرمایہ ہے ۔ جس کی ذمہ داری روحانی رہبر سنتوں کو سونپی ہوئی ہے (1) جس کے دلمیں ایسے خیالات بن جاتے ہیں۔ اسکا ذہن ایسا ہوجاتا ہے کہ اس کے ذہن میں دنیاوی خیالات کی لہریں اور روہیں اُٹھتی ہی نہیں اور اسکا اپنا ذہن ایک پہاڑی گچھا کی شکل اختیار کر لیتا ہے اور دنیاوی کاروبار سے کوئی واسطہ نہیں رہتا اور اس میں صرف خدا کی ہی سکونت رہتی ہے اور خدا کا اس سے ملاپ ہوجاتا ہے اس کے ذہن میں خوشی غمی اور موت و پیدائش کا کوئی خیال نہیں رہتا (3) اپنی کرم و عنایت سے جس کے ذہن میں ایسے حالات پیدا کر دیتا ہے اسے پاکدامن کی صحبت میں رہ کر الہٰی نام سچ و حقیقت کا خزانہ حاصل کر لیتا ہے اے رحمان الرحیم نانک عرض گذارتا ہے کہ خدا سے میرا رشتہ ہے اور خدا ہی میرا سرمایہ ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
مہِمانجانہِبید॥
ب٘رہمےنہیِجانہِبھید॥
اۄتارنجانہِانّتُ॥
پرمیسرُپارب٘رہمبیئنّتُ॥੧॥
اپنیِگتِآپِجانےَ॥
سُنھِسُنھِاۄرۄکھانےَ॥੧॥رہاءُ॥
سنّکرانہیِجانہِبھیۄ॥
کھوجتہارےدیۄ॥
دیۄیِیانہیِجانےَمرم॥
سبھاوُپرِالکھپارب٘رہم॥੨॥
اپنےَرنّگِکرتاکیل॥
آپِبِچھورےَآپےمیل॥
اِکِبھرمےاِکِبھگتیِلاۓ॥
اپنھاکیِیاآپِجنھاۓ॥੩॥
سنّتنکیِسُنھِساچیِساکھیِ॥
سوبولہِجوپیکھہِآکھیِ॥
نہیِلیپُتِسُپُنّنِنپاپِ॥
نانککاپ٘ربھُآپےآپِ॥੪॥੨੫॥੩੬॥
لفظی معنی:
مہما ۔ عظمت۔ بلندی ۔ برہمے ۔ بیشمار برہمے ۔ بھید ۔ راز اوتار۔ پیغمبر ۔ رسول۔ انت۔ آخر۔ پر میسر ۔ پرم ایشور۔ بلند روح۔ پار برہم۔ ایسا خدا جس میں پار لگانے کی توفیق ہے ۔ بے انت۔ جس کی آخر نہیں (1) گت ۔ حالت۔ اور۔ دوسروں۔ وکھانے ۔ بیان کرئے بتائے (1) رہاؤ۔ سنکر ۔ شو جی ۔ بھیو۔ بھید ۔ راز۔ کھوجت ۔ تلاش کرتے ۔ مرم۔ راز۔ الکھ ۔ سمجھ سے باہر۔ پار برہم ۔ کامیابی عنایت کرنے والا (2) اپنے رنگ ۔ اپنے پریم پیار ۔ اپنی خوشی سے ۔ کیل۔ کھیل۔ بچھورے ۔ جدا کرتا ہے ۔ میل۔ ملاتا ہے ۔ بھر مے ۔ بھٹکتے ہیں۔ بھگتی ۔ خدمت خدا۔ عبادت و ریاضت الہٰی ۔ جنائے ۔ سمجھائے (3) سچای سکھی ۔ سچی نصیحت۔ سکھیا۔ واعظ۔ سو بولیہہ ۔ وہی کہتے ہیں۔ پیکھیہہ آکھی ۔ جو آنکھوں سے دیکھتے ہیں۔ لیپ۔ لاگ۔ تابعہ تاثر۔ پن ۔ ثواب۔ پاپ ۔ گناہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اپنے حالات کو خدا کیسا ہے وہ خود ہی جانتا ہے ۔ دوسرے سن سن کر بتاتے ہیں (1) رہاؤ۔ اس کی عظمت اور حالات ویدوں میں بھی نہیں ۔ برہماؤں کو اس کا راز معلوم نہیں۔ پیغمبروں کو اس کی آخر معلوم نہیں۔ اس بلند ترین روح اور پار لگانے والا اعداد و شمار سے باہر ہے (1) شو جی بھی الہٰی راز نہیں جانتا بہت سے دیوتے اس کی جستجو کرتے کرتے ماند پڑ گئے اور نہ ہی دیویوں کو اسکا راز معلوم ہوا ۔ خدا سمجھ سے افضل ترین ہستی ہے ۔ وہ کامیابی عنایت کرنے والی ہے (2) خدا اپنی خوشیوں کے انداز نہیں کار ساز کرتار کھیل کھیل رہا ہے ۔ خود ہی جدائی دیتا ہے اور خود ہی ملاتا بھی ہے ایک بھٹک رہے ہیں اور ایک خدمت خدا میں مصروف ہیں اور خود ہی عالم پیدا کرکے خود ہی عقل و شعور عنایت کرتا ہے (3) الہٰی روحانی رہبروں کی سچی واعظ سنہو وہ وہی کہتے ہیں جو انہیں نے آنکھوں سے دیکھا ہے ۔ انہیں گناہ وثواب سے کوئی واسطہ نہیں ۔ اے نانک۔ نانک کا خدا جیسا وہ ہے کوئی دوسرا نہیں۔

رامکلیِمہلا੫॥
کِچھہوُکاجُنکیِئوجانِ॥
سُرتِمتِناہیِکِچھُگِیانِ॥
جاپتاپسیِلنہیِدھرم॥
کِچھوُنجانءُکیَساکرم॥੧॥
ٹھاکُرپ٘ریِتمپ٘ربھمیرے॥
تُجھبِنُدوُجااۄرُنکوئیِبھوُلہچوُکہپ٘ربھتیرے॥੧॥رہاءُ॥
رِدھِنبُدھِنسِدھِپ٘رگاسُ॥
بِکھےَبِیادھِکےگاۄمہِباسُ॥
کرنھہارمیرےپ٘ربھایک॥
نامتیرےکیِمنمہِٹیک॥੨॥
سُنھِسُنھِجیِۄءُمنِاِہُبِس٘رامُ॥
پاپکھنّڈنپ٘ربھتیرونامُ॥
توُاگنتُجیِءکاداتا॥
جِسہِجنھاۄہِتِنِتوُجاتا॥੩॥
جواُپائِئوتِسُتیریِآس॥
سگلارادھہِپ٘ربھگُنھتاس॥
نانکداستیرےَکُربانھُ॥
بیئنّتساہِبُمیرامِہرۄانھُ॥੪॥੨੬॥੩੭॥
لفظی معنی:
کچھہو کاج ۔ کوئی بھی کام ۔ کیؤ ۔ کیا۔ جان ۔ سمجھ ۔ سرت۔ ہوش۔ مت۔ عقل۔ گیان۔ علم ۔ جاپ تاپ ۔ عبادت و ریاضت ۔ سیل۔ شرافت۔ نیک چال چلن ۔ دھرم۔ فرائض انسانیت ۔ کچھو نہ جانیو ۔ کچھ بھی نہیں جانتا۔ کرم۔ اعمال۔ بخشش (1) ٹھاکر۔ مالک ۔ پریتم ۔ پیارے ۔ تجھ بن ۔ تیرے بغیر ۔ اور دوسرا۔ بھو لیہہ ۔ بھول میں۔ چوکیہہ ۔ گمراہی میں (1) رہاؤ۔ ردھ ۔ کراماتی ۔ معجزہ کرنے کی طاقت ۔ بدھ ۔ علق و دانش ۔ سدھ ۔ معجزے ۔ پر گاس۔ روشنی ۔ بکھے ۔ برائیوں ۔ بیادھ کے گاد۔ بیماریاں کے گاؤں ۔ باس۔ بسنا۔ کرنیہار۔ کرنے کی توفیق رکھنے والا۔ ٹیک۔ آسرا (2) جیؤ۔ زندگی ملتی ہے ۔ زندہ ہوں ۔ بسرام۔ سکون ۔ پاپ کھنڈن ۔ گناہوں کو مٹانے والا۔ اگنت۔ شمار سے بعید ۔ جیئہ کا داتا۔ زندگی کی نعمت بخشنے والا۔ جناویہہ۔ سمجھائے ۔ جاتا ۔ جانتا ہے (3) اُپائیو ۔ پیدا کیا ہے ۔ آس۔ امید ۔ ارادھیہہ۔ ریاضت کرتے ہیں۔ گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ ۔ صاحب۔ مالک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے پیارے آقا خدا تیرے بغیر ہمارا کوئی نہیں۔ اگر گمراہ ہیں یا زندگی کی راہ سے بھٹک گئے ہیں تاہم تیرے بغیر ہمارا نہیں کوئی (1) رہاؤ۔ مجھے کسی کام کی واقفیت نہیں نہ ہوش و عقل اور علم ہے نہ فرائض کی ادائیگی نہ شرافت اور نہ ہی عبادت و ریاضت نہ اعمال کی واقفیت ۔ نہ معجزوں کی طاقت نہ عقل و دانش نہ ذہنی روشنی ۔ برائیوں او ر بیماریوں کے گھر اور گاوں میں ہے ۔ ٹھکانہ ۔ اے میرے واحد کار ساز خدا میرے دل میں تیرے نام سچ و حق و حقیقت کا ہی آسرا ہے ۔ یہ سن سن کر دل کو تسلی ملتی ہے کہ تیرا نام گناہوں کو مٹانے والا ہے ۔ تو بیشمار کو نعمتیں بخشنے والا ہے ۔ جیسے تو سمجھائے وہی اس بات کو سمجھتا ہے (3) جیسے تو نے پیدا کیا ہے وہ ہی تجھ سے امید کرتا ہے اے اوصاف کی خزانے سارے تیری یادو ریاض کرتے ہیں ۔ خادم نانک تجھ پر قربان ہے ۔ اے خدا تو ہے میرا آقا مہربان اور اعداد و شمار سے بعید ۔

رامکلیِمہلا੫॥
راکھنہاردئِیال॥
کوٹِبھۄکھنّڈےنِمکھکھِیال॥
سگلارادھہِجنّت॥
مِلیِئےَپ٘ربھگُرمِلِمنّت॥੧॥
جیِئنکوداتامیراپ٘ربھُ॥
پوُرنپرمیسرُسُیامیِگھٹِگھٹِراتامیراپ٘ربھُ॥੧॥رہاءُ॥
تاکیِگہیِمناوٹ॥
بنّدھنتےہوئیِچھوٹ॥
ہِردےَجپِپرماننّد॥
منماہِبھۓاننّد॥੨॥
تارنھترنھہرِسرنھ॥
جیِۄنروُپہرِچرنھ॥
سنّتنکےپ٘رانھادھار॥
اوُچےتےاوُچاپار॥੩॥
سُمتِسارُجِتُہرِسِمریِجےَ॥
کرِکِرپاجِسُآپےدیِجےَ॥
سوُکھسہجآننّدہرِناءُ॥
نانکجپِیاگُرمِلِناءُ॥੪॥੨੭॥੩੮॥
لفظی معنی:
راکھنہار ۔ رکھنے کی توفیق رکھنے والا۔ دیال۔ مہربان۔ بھو ۔ تناسخ۔ کھنڈے مٹاتا ہے ۔ زندگی مدعا و مقصد ۔ نمکھ ۔ خیال ۔ تھوڑے سے خیال سے ۔ گرمل منت۔ سبق مرشد سے (1) گھٹ گھٹ راتا ۔ ہر ۔ دلمیں بسا ہوا (1) رہاؤ۔ اوٹ۔ آسرا۔ گہی ۔ پکڑی ۔ حاصل کی ۔ بندھن ۔ غلامی ۔ پر مانند۔ ۔ جو مکمل طور پر سکون ہے ۔ انند پر سکون خوشی (2) تارن۔ تیر نے کے لئےا یک آلہ ۔ جہاز۔ ہر سرن۔ الہٰی پناہ ۔ جیون روپ ۔ زندگی کی شکل ۔ پران ادھار۔ زندگی کاآسرا۔ اپار۔ بیشمار (3) سومت سار ۔ وہی عقل بلند ہے ۔ آپے ۔ زاز خود۔ سوکھ سہج ۔ روحانی وذہنی سکون ۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا خدا سبھ کو نعمتیں عنایت کرنے والا ہے وہ کامل ہے وہ ہر دلمیں بستا ہے (1)ر ہاؤ۔ وہ مہربان ہے حفاظت کرنے کی توفیق رکھتا ہے ۔ آنکھ جھپکنے کی دیر کے لئے اس یاد سے دیرینہ تناسخ مٹ جاتے ہیں۔ سارے جیوا اس کی یادو ریاض کرتے ہیں ۔ سبق مرشد سے اسکا ملاپ حاصل ہو سکتا ہے (1) میرے دل نے اسی کا آسرا لیا ہے ۔ اس سے غلامی سے نجات حاصل ہوئی اور دلمیں اس کی یادخیال سے دل کو سکون حاصل ہوا اور خوشی محسوس ہوئی (2) الہٰی پناہ وسا یہ زندگی کے دشوار گذار سمندر کو عبور کرنے کے لئےا یک بحری جہاز ہے ۔ اور اس کے مبارک مقدس قدم روحانی زندگی بخشش کرنے والے ہیں۔ پرماتما روحانی رہبروں سنتوں کی زندگی کے لئے آسرا ہے ۔ وہ ناہیت سب سے بلند سے بالا عظمت والا ہے (3) اے انسان ایسی عقل و شعور اختیار کر جس کے ذریعے الہٰی ریاضت و عبادت ہو سکے ۔ جسے خدا خود اپنی کرم و عنایت سے دیتا ہے الہٰی نام سچ و حقیقت روحانی سکون مستقل مزاجی کا سر چشمہ ہے ۔ نانک نے مرشد کے ملاپ سے اسے یاد کیا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
سگلسِیانپچھاڈِ॥
کرِسیۄاسیۄکساجِ॥
اپناآپُسگلمِٹاءِ॥
منچِنّدےسیئیِپھلپاءِ॥੧॥
ہوہُساۄدھاناپُنےگُرسِءُ॥
آسامنساپوُرنہوۄےَپاۄہِسگلنِدھانگُرسِءُ॥੧॥رہاءُ॥
دوُجانہیِجانےَکوءِ॥
ستگُرُنِرنّجنُسوءِ॥
مانُکھکاکرِروُپُنجانُ॥
مِلیِنِمانےمانُ॥੨॥
گُرکیِہرِٹیکٹِکاءِ॥
اۄرآساسبھلاہِ॥
ہرِکانامُماگُنِدھانُ॥
تادرگہپاۄہِمانُ॥੩॥
گُرکابچنُجپِمنّتُ॥
ایہابھگتِسارتتُ॥
ستِگُربھۓدئِیال॥
نانکداسنِہال॥੪॥੨੮॥੩੯॥
لفظی معنی:
سیانپ ۔ دانشمندی ۔ سیوا۔ خدمت۔ سیوک۔ ساج ۔ خدمتگار بنا کر ۔ اپنا آپ ۔ خودی ۔ من چندے ۔ دل میں سے ہوئے ۔ سیئی پھل ۔ وہی نتیجے (1) ساددھان ۔ جاگت ۔ بیدار ۔ گر سیو ۔ مرشد سے ۔ آسا۔ امید ۔ منسا۔ ارادہ ۔ سگل ندھان۔ سارے خزانے ۔ گر سیو۔ مرشد سے (1) رہاؤ۔ نرنجن۔ بیداگ۔ پاک ۔ روپ ۔ شکل۔ نمانے ۔ بے عزت ۔ بے وقار۔ مان۔ وقار۔ قدر (2) ٹیک۔ آسرا۔ آسا سبھ لاہے ۔ امیدیں ختم کر دے ۔ ماگ ۔ ندھان۔ خزانہ ۔ ۔ مانگ ۔ درگیہہ۔ عدالت۔ مان ۔ عزت۔ قدروقیمت (3) منت۔ سبق۔ بھگت سار تت۔ یہی حقیقی بھگتی ہے ۔ نہال۔ خوش و خرم
ترجمہ معہ تشریح:
سبق مرشد میں دھیان لگا نے سے اس سے امیدیں اور ارادے پورے ہونگے مرشد سے سارے خزانے پائیگا (1) رہاؤ۔ اے انسان دانشمندی کے خیالات چھور کر خدمتگار ہوکر خدمت کر اور خودی مٹادے اس سے دلی خواہش کیمطابق نتیجے بر آمد ہونگے (1) دوسرا نہیں سمجھتا کوئی ۔ سچا مرشد ہی پاک خدا کو سمجھتا ہے ۔ اسے انسان کی شکل وصورت میں نہ سمجھ عاجزوں انکساروں کو ہی عزت اور وقار حاصل ہوتا ہے (2) مرشد اور خدا و اپنا آسرا بنا باقی ساری اُمیدی مٹادے الہٰی نام کے خزانہ مانگ ۔ تاکہ بارگاہ الہٰی میں توقیر حاصل ہو (3) کلام مرشد کو منتر سمجھ اور اس کی ریاض کی یہی عبادت و ریاضت و عشق الہٰی کا مول یا اصل ہے ۔ اے نانک جن پر سچا مرشد مہربان ہوتا ہے ۔ ایسے خدمتگار ہمیشہ خوشباش رہتے ہیں۔

رامکلیِمہلا੫॥
ہوۄےَسوئیِبھلمانُ॥
آپناتجِابھِمانُ॥
دِنُریَنِسداگُنگاءُ॥
پوُرنایہیِسُیاءُ॥੧॥
آننّدکرِسنّتہرِجپِ॥
چھاڈِسِیانپبہُچتُرائیِگُرکاجپِمنّتُنِرمل॥੧॥رہاءُ॥
ایککیِکرِآسبھیِترِ॥
نِرملجپِنامُہرِہرِ॥
گُرکےچرننمسکارِ॥
بھۄجلُاُترہِپارِ॥੨॥
دیۄنہارداتار॥
انّتُنپاراۄار॥
جاکےَگھرِسربنِدھان॥
راکھنہارنِدان॥੩॥
نانکپائِیاایہُنِدھان॥
ہرےہرِنِرملنام॥
جوجپےَتِسکیِگتِہوءِ॥
نانککرمِپراپتِہوءِ॥੪॥੨੯॥੪੦॥
لفظی معنی:
ہووے ہوتا ہے ۔ بھل ۔ اچھا۔ نیک ۔ ابھیمان ۔ غرور ۔ تکبر۔ رین ۔ رات۔ پورن ۔ مکمل ۔ سوآؤ۔ مقصد ۔ مطلب (1) منت۔ نصیحت ۔ واعظ ۔ سبق۔ نرمل۔ بیلاگ۔ پاک (1) رہاؤ۔ بھیتر ۔ اندر۔ دلمیں ۔ نمسکار ۔ پیشانی یا سر جھکاؤ ۔ سجدہ کرنا۔ بھوجل۔ خوفناک سمندر (2) داتار ۔ دینے والا ۔ انت۔ آخر۔ پار اوار۔ اتنا وسیع کہ کنارہ نہیں۔ سرب۔ ندھان۔ سارے خزانے ۔ راکھنہار۔ حفاظت کی توفیق رکھنے والا۔ ندان۔ بوقت ۔ آخرت (3) ندھان خزانہ ۔ نرمل نام ۔ پاک الہٰی ۔ نام سچ حق و حقیقت ۔ گت ۔ بلندر روحانی حالت۔ کرم۔ بخشش۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان خدا اور روحانی رہبر کو دیا رکھ دانشمندی اور چالاکی و ہوشیاری چھوڑ کر مرشد کا پاک سبق یاد کر (1)ر ہاؤ۔ جو کچھ ہو رہا ہے اسے اچھا سمجھ اپنا غرور چھوڑ دن رات ہمیشہ حمدوثناہ کیجیئے زندگی کا یہی مدعا و مقصد ہے (1) واحد خدا سے امید رکھ اپنے دلمیں اور پاک الہٰی نام سچ و حقیقت ہمیشہ یاد کرتے رہو۔ قدم مرشد پر سجدہ کر سرجھکا بطو تظیم آداب اسے سے اس خوفناک سمندر کی مانندزندگی میں کامیابی حاصل ہوگی (2) دینے والا خدا دینے کی توفیق رکھتا ہے ۔ جو اتنا وسیع ہے کہ کنارہ نہیں جو سارے خزانوں کا مالک ہے اور آخر کار محافظ بھی وہی ہے (3() نانک نے یہ خزانہ پا لیا خدا کا پاک سچ و حقیقت جو اسے یاد کرتا ہے اور وہ بلند روحانی واخلاقی زندگی پاتا ہے ۔ اور ہوجاتی ہے مگر اے نانک یہ نام سچ وحقیقت کا خزانہ الہٰی کرم وعنایت سے ملتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
دُلبھدیہسۄارِ॥
جاہِندرگہہارِ॥
ہلتِپلتِتُدھُہوءِۄڈِیائیِ॥
انّتکیِبیلالۓچھڈائیِ॥੧॥
رامکےگُنگاءُ॥
ہلتُپلتُہوہِدوۄےَسُہیلےاچرجپُرکھُدھِیاءُ॥੧॥رہاءُ॥
اوُٹھتبیَٹھتہرِجاپُ॥
بِنسےَسگلسنّتاپُ॥
بیَریِسبھِہوۄہِمیِت॥
نِرملُتیراہوۄےَچیِت॥੨॥
سبھتےاوُتماِہُکرمُ॥
سگلدھرممہِس٘ریسٹدھرمُ॥
ہرِسِمرنِتیراہوءِاُدھارُ॥
جنمجنمکااُترےَبھارُ॥੩॥
پوُرنتیریِہوۄےَآس॥
جمکیِکٹیِئےَتیریِپھاس॥
گُرکااُپدیسُسُنیِجےَ॥
نانکسُکھِسہجِسمیِجےَ॥੪॥੩੦॥੪੧॥
لفظی معنی:
دلبھ ۔ نایاب۔ دیہہ۔ جسم۔ سوآر۔ درست بنا۔ درگیہہ ۔ بارگاہ ۔ الہٰی ۔ ہار۔ شکست ۔ ہلت پلت ۔ ہر دو عالموں میں۔ وڈیائی ۔ عظمت و حشمت ۔ اچرج ۔ حیرانگی ۔ دھیاوؤ۔ دھیان لگاؤ ۔ انت کی بیلا۔ بوقت آخرت (1) سہیلے ۔ آسان۔ اچرج ۔ حیران۔ (1) رہاؤ۔ ونسے ۔ مٹے ۔ سنتاپ ۔ عذاب۔ بیری ۔ دشمن ۔ میت ۔ دوست۔ نرم ۔ پاک ۔ قلب۔ دل (2) اُتم ۔ نیک۔ کرم ۔ اعمال۔ دھرم۔ فرض انسانی ۔ سر یشٹ۔ اعلے ۔ ادھار ۔ آسرا۔ بھار۔ گناہوں کا بوجھ (3) پورن ۔ مکمل۔ آس۔ اُمید۔ پھاس۔ پھندہ۔ اُپدیش ۔ ہدایت۔ نصیحت ۔ سبق۔ واعظ ۔ سکھ سہج سمجھے ۔ آرام و آسائش و روحانی و ذہنی سکون پاوگے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانو الہٰی حمدوثناہ کرؤ اس سے ہر دو عالموں میں آرام پاؤ گے اس حیران کرنے والے خدا میں دھیان لگاؤ (1) رہاؤ۔ اس نایاب جسم کی درستی کر ؤ کہیں باگاہ خدا میں شکست نہ کھا جائے ۔ تاکہ تیری دونوں عالموں میں تجھے عظمت حاصل ہو اور بوقت آخرت نجات حاصل ہو (1) ہر وقت اُٹھتے بیٹھتے یاد رکھو تاکہ تیرے سارے عذاب مٹ جائیں۔ سارے دشمن دوست بن جائیں۔ اور تو پاک دل ہوجائے (2) سب سے اچھا اور نیک ہے یہ اعمال۔ سب انسانی و مذہبی فرائض میں سے اعلے فرض ہے یہ ۔ الہٰی یادو ریاض سے تجھے کامیابی حاصل ہوگی اور دیرینہ گناہوں کا بوجھ ختم ہو جائیگا (2) اے نانک۔ روحانی وذہنی سکون میں رہیگا ۔ امید پوری ہونگی موت کا پھندہ کٹ جائیگا واعظ مرشد سننے سے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
جِسکیِتِسکیِکرِمانُ॥
آپنلاہِگُمانُ॥
جِسکاتوُتِسکاسبھُکوءِ॥
تِسہِارادھِسداسُکھُہوءِ॥੧॥
کاہےبھ٘رمِبھ٘رمہِبِگانے॥
نامبِناکِچھُکامِنآۄےَمیرامیراکرِبہُتُپچھُتانے॥੧॥رہاءُ॥
جوجوکرےَسوئیِمانِلیہُ॥
بِنُمانےرلِہوۄہِکھیہ॥
تِسکابھانھالاگےَمیِٹھا॥
گُرپ٘رسادِۄِرلےمنِۄوُٹھا॥੨॥
ۄیپرۄاہُاگوچرُآپِ॥
آٹھپہرمنتاکءُجاپِ॥
جِسُچِتِآۓبِنسہِدُکھا॥
ہلتِپلتِتیرااوُجلمُکھا॥੩॥
کئُنکئُناُدھرےگُنگاءِ॥
گننھُنجائیِکیِمنپاءِ॥
بوُڈتلوہسادھسنّگِترےَ॥
نانکجِسہِپراپتِکرےَ॥੪॥੩੧॥੪੨॥
لفظی معنی:
جسکی ۔ جس کی کوئی ایشا ہے ۔ اس کی اسی کی ۔ مان سمجھ ۔ خیال کر ۔ گمان۔ غرور۔ ارادھ ۔ یاد کر (1) بھرم بھرمیہہ۔ وہم و گمان میں بھٹکتا ہے ۔ بیگانے ۔ بے گیانے ۔ بے علم۔ نادان۔ نام بنا۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر (1) رہاؤ۔ مان لیہو ۔ تسلیم کر لو ۔ کھیہہ ۔ مٹی ۔ ذلیل و خوار۔ بھانا۔ رضا۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔ من ووٹھا۔ دلمیں بستا ہے (2) بے پرواہ ۔ بے محتاج ۔ اگوچر۔ انسانی سوچ اور ذہن سے بعید۔ جاپ ۔ یاد کر۔ اجل مکھا۔ سر خرو (3) ادھرے ۔ کامیاب ہوئے ۔ گن ۔ شمار ۔گنتی ۔ کیم۔ قیمت ۔ قدر۔ ۔ بوڈھت لوہ ۔ ڈوبتا لوہا۔ مراد گناہوں کے بوجھ سے لدا ہوا۔ سادھ سنگ۔ پاکدامن کی صحبت و ساتھ سے ۔ ترے ۔ کامیاب ہوجاتا ہے ۔ پراپت کرئے ۔ حاصل کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے بے علم کیوں بیگانکی کے وہم وگمان میں بھٹک رہا ہے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر کوئی شے کام نہیں آتی میری میری کرکے بہت پچھتاتے ہیں۔ رہاؤ۔ جس کی کوئی شے ہے اسے اسی ہی کی تسلیم کر مان اور دل سے تمام شکوک رفع کر ۔ جسکا تو ہے اسی کا ہی سارے ہیں۔ اسے یاد کر نے سے ہمیشہ سکھ ملتے ہیں (1) جو جو خدا کرتا ہے ۔ اسی میں راضی رہ اسے نہ مان کر مٹی ہو جائیگا مراد ذلیل و خوار ہوگا۔ الہٰی رضا کو اچھا سمجھ ۔ مگر رحمت مرشد سے کسی کے ہم دلمیں بستا ہے (2) خدا بے محتاج اور انسانی ذہنی قوت سے بالاتر ہے ۔ اے دل اسے ہر وقت یاد کر۔ جس کے دلمیں ہے اس کی یاد سے اس کے عذاب مٹ جاتے ہیں۔ اور ہر دو عالم سر خرو ہوتا ہے (3) شمار نہیں ہو سکتا جنہوں نے الہٰی :حمدوثناہ کرکے کامیابی حاصل کی ۔ ڈوبتے لوہے کی مانند صحبت و قربت پاکدامن سے قدرو منزلت نہیں پائی ۔ مگر اے نانک وہی کرتا ہےجسے خدا سے یہ نعمت حاصل ہو۔

رامکلیِمہلا੫॥
منماہِجاپِبھگۄنّتُ॥
گُرِپوُرےَاِہُدیِنومنّتُ॥
مِٹےسگلبھےَت٘راس॥
پوُرنہوئیِآس॥੧॥
سپھلسیۄاگُردیۄا॥
کیِمتِکِچھُکہنھُنجائیِساچےسچُالکھابھیۄا॥੧॥رہاءُ॥
کرنکراۄنآپِ॥
تِسکءُسدامنجاپِ॥
تِسکیِسیۄاکرِنیِت॥
سچُسہجُسُکھُپاۄہِمیِت॥੨॥
ساہِبُمیرااتِبھارا॥
کھِنمہِتھاپِاُتھاپنہارا॥
تِسُبِنُاۄرُنکوئیِ॥
جنکاراکھاسوئیِ॥੩॥
کرِکِرپاارداسِسُنھیِجےَ॥
اپنھےسیۄککءُدرسنُدیِجےَ॥
نانکجاپیِجپُجاپُ॥
سبھتےاوُچجاکاپرتاپُ॥੪॥੩੨॥੪੩॥
لفظی معنی:
بھگونت ۔ بھگوان ۔ خدا۔ منت۔ واعظ۔ نصیحت۔ سبق ۔ بھے تراس۔ خوف۔ پورن ۔ مکمل۔ آس ۔ آُمید ۔ سپھل ۔ برآور۔ پھل دینے والی (1) سیوا۔ خدمت۔ گر دیو ۔ دیوتاوں کا مرشد۔ قیمت ۔ قدرومنزلت۔ ساچے ۔ صدیوی سچے ۔ الکھ ۔ جسے سمجھا نہ جا سکے ۔ ابھیو ۔ جسکا راز سمجھ نہ آئے (1) رہاؤ۔ کرن کرادن ۔ کرنے اور کروانے والا۔ جاپ ۔ یاد کر۔ سچ سہج سکھ ۔ صدیوی روحانی یا ذہنی سکھ ۔ میت۔ دوست (2) تھا پ ۔ پیدا کرکے ۔ اتھا پنہارا۔ مٹانے کی توفیق رکھنے والا۔ اور۔ راکھا ۔ محافظ (3) ارداس۔ عرض۔ درسن ۔ دیدار۔ جاپی ۔ یاد کرتا رہوں۔ پرتاپ۔ قوت۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدمت خدا بر آور ہوتی ہے ۔ جس کی قدرومنزلت بیان نہیں ہو سکتی ۔ جو صدیوی سچا انسانی عقل و ہوش سے بعید ہے (1) رہاؤ۔ دل میں یاد کرؤ خدا کو کامل مرشد نے یہ سبق دیا ہے تاکہ تمام خوف و ہر اس مٹ جائیں اور ہر ایک امید پوری ہو (1) کرنے اور کروانے والا ہے خود خدا یا د رکھ دلمیں ہمیشہ ہر روز اس کی کرؤ خدمت اے دوست اس سے صدیوی روحانی سکون پائیگا 2) میرا آقا نہایت سنجیدہ اور مستقل مزاج ہے آنکھ جھپکنے کے وقفے میں پیدا کرکے مٹانے کی توفیق رکھتا ہے ۔ اس کے بغیر نہیں ایسی ہستی کوئی ۔ وہی ہے محافظ اپنی مخلوق کا (3) اپنی کرم و عنایت و شفقت سے میری گذار سنیئے اپنے خدمتگار کو دیدار دیجیئے جو سبھ سے بلند قوتوں کا مالک ہے ۔ نانک ہمیشہ تیرا نام سچ و حقیقت یاد رکھتا رہوں۔

رامکلیِمہلا੫॥
بِرتھابھرۄاسالوک॥
ٹھاکُرپ٘ربھتیریِٹیک॥
اۄرچھوُٹیِسبھآس॥
اچِنّتٹھاکُربھیٹےگُنھتاس॥੧॥
ایکونامُدھِیاءِمنمیرے॥
کارجُتیراہوۄےَپوُراہرِہرِہرِگُنھگاءِمنمیرے॥੧॥رہاءُ॥
تُمہیِکارنکرن॥
چرنکملہرِسرن॥
منِتنِہرِاوہیِدھِیائِیا॥
آننّدہرِروُپدِکھائِیا॥੨॥
تِسہیِکیِاوٹسدیِۄ॥
جاکےکیِنےہےَجیِۄ॥
سِمرتہرِکرتنِدھان॥
راکھنہارنِدان॥੩॥
سربکیِرینھہوۄیِجےَ॥
آپُمِٹاءِمِلیِجےَ॥
اندِنُدھِیائیِئےَنامُ॥
سپھلنانکاِہُکامُ॥੪॥੩੩॥੪੪॥
لفظی معنی:
برتھا ۔ بھرواسا۔ بیکار بیفائہ ہے بھروسا۔ ٹیک۔ آسرا ۔ آس ۔ امید ۔ اچنت ۔ بیفکر۔ بھیٹے ۔ ملاپ کیا۔ گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ (1) دھیائے ۔ دھیان لگائے ۔ کارج ۔ کام ۔ ہرگن گائے ۔ الہٰی حمدوثناہ سے (1)ر ہاؤ ۔ ہر سرن ۔ا لہٰی پناہ۔ وہی ۔ وہی ۔ آنند ہر ۔ پر سکون خدا (2) اوٹ صدیو ۔ ہمیشہ کے لئے ۔ حفاظت کی توفیق رکھنے والا۔ ندان۔ آخر کار (3) رین ۔ دہول۔ آپ مٹائیے ۔ خودی دور کر کے ۔ اندن ۔ ہر روز ۔ دھیایئے ۔ نام ۔ سچ و حقیقت میں دھیان لگا کر ۔ سپھل ۔ کامیاب۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل واحد خدا کے نام سچ و حقیقت کو یاد کیا کر ۔ اور ہمیشہ الہٰی صفت صلاح کیا کر اے دل تیرا کام مکمل ہونگے (1)ر ہاؤ۔ لوگوں پر اعتماد فضول ہے خدا ہی تیرا لئے ایک آسرا ہے ۔ بیفکر ہوکر اوصاف کے خزانے کے مالک سے ملاپ کر اور امید چھوڑ دے ۔ اے دل واحد الہٰی نام سچ و حقیقت میں دھیان لگا (1) اے خدا تو ہی سرب پیدا کرنے والا ہے تیرے مبارک قدم انسان کے لئے پناہ گاہ ہیں۔ اسے ہی دل وجان سے اس میں دھیان لگاو ۔ اس کے لئے یہی آرام و سکون کا راستہ دکھا دیا (2) ہمیشہ صدیوی اسی کا آسرا ہے ۔ جس نے ساری مخلوقات پیدا کی ہے ۔ الہٰی یاد ہی خزانہ بنانا ہے ۔ بوقت اخرت خدا ہی محافظ ہے (3) سب کے قدموں کی خاک بن جا اپنے آپ کو مٹانے سے ہی ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔ ہر روز سچ و حقیقت میں دھیان لگاؤ اسے کامیابی اور پھل نصیب ہوتا ہے اے نانک۔

رامکلیِمہلا੫॥
کارنکرنکریِم॥
سربپ٘رتِپالرہیِم॥
الہالکھاپار॥
کھُدِکھُداءِۄڈبیسُمار॥੧॥
اوُںنموبھگۄنّتگُسائیِ॥
کھالکُرۄِرہِیاسربٹھائیِ॥੧॥رہاءُ॥
جگنّناتھجگجیِۄنمادھو॥
بھءُبھنّجنرِدماہِارادھو॥
رِکھیِکیسگوپالگد਼ۄِنّد॥
پوُرنسربت٘رمُکنّد॥੨॥
مِہرۄانمئُلاتوُہیِایک॥
پیِرپیَکاںبرسیکھ॥
دِلاکامالکُکرےہاکُ॥
کُرانکتیبتےپاکُ॥੩॥
نارائِنھنرہردئِیال॥
رمترامگھٹگھٹآدھار॥
باسُدیۄبستسبھٹھاءِ॥
لیِلاکِچھُلکھیِنجاءِ॥੪॥
مِہردئِیاکرِکرنیَہار॥
بھگتِبنّدگیِدیہِسِرجنھہار॥
کہُنانکگُرِکھوۓبھرم॥
ایکوالہُپارب٘رہم॥੫॥੩੪॥੪੫॥
لفظی معنی:
کارن ۔ سبب۔ بنیاد۔ کرن۔ کرنے والا۔ بنانے والا۔ کریم ۔ بخشش کرننے والا۔ سرب پرتپال ۔ سب کی پرورش کرنے والا۔ پروردگار ۔ اللہ الکھ ۔ ایسا خدا جو انسانی سمجھ سے بعید ہے ۔ اپار ۔ جو اتنا وسیع ہے کہ کنارہ نہیں۔ خود خدا نے ۔ جو از خود مالک عالم ہے ۔ وڈبیمار۔ نہایت عظیم ہستی کہ شمار نہیں ہو سکتی ۔ کہ کتنی عطیم ہے (1) اونمو۔ سجدہ ہے اس سب میں بسنے والے قادر قائنات کو ۔ بھگونت ۔ قادر مطلق ۔ گرسائیں۔ آقا۔ خالق۔ خلقت پیدا کرنے والا خلقعت کا ملاک۔ رورہیا سرب ٹھائیں۔ جو سب جگہ بستا ہے (1) رہاؤ۔ جگناتھ ۔ مالک عالم۔ جگ جیون ۔ عالم کو زندگی بخشنے والا۔ مادہو ۔ قادر قائنات۔ بھوبھنجن۔ خوف دور کرنے والا۔ رد ۔د لمیں۔ ارادہو۔ یاد رکھو ۔ بساو۔ رکھی کیس۔ مالک اعضا۔ گوپال گوبند۔ مراد ۔ خدا۔ پورن۔ مکمل۔ سر سر ۔ سب میں۔ مکند۔ نجات دہندہ ۔ آزادی دلانے والا (2) مولا ۔ نجات ۔ دہندہ ۔ پیر ۔ بزرگ ۔ بلند عظمت۔ پیکانبر۔ پیامبر۔ پیغمبر۔ قاصد خدا۔ الہٰی پیغام لانے والا۔ سیخ۔ بزرگ ہستی ۔ ٹک ۔ آواز ۔ حق انصاف۔ پاک۔ مقدم ۔نارائن مراد خدا ۔ نرہر سے بھی مراد خدا۔ رمت۔ بستا ہے ۔گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں۔ واسدیو ۔ کرشن سے بھی مراد خدا۔ بست سب ٹھائے ۔ ہر جگہ ۔ لیلا۔ کھیل۔ لکھی نہ جائے ۔ سمجھ نہیں آتی (4) کرنیہار۔ کرنے کی توفیق رکھنے والا۔ بھگت بندگی ۔ الہٰی اداب و محبت ۔ عبادت و ریاضت ۔ سر جنہار ۔ قائنات قدرت کو پیدا کرنے والا قادر ۔ بھرم۔ بھٹکن ۔ گمراہی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے تقدیر ساز مالک عالم تجھے سر جھکاتا ہوں سجدہ کرتا ہوں ملا بلاتا ہوں ت و خالق خلقت ہر جگہ بستا ہے (1) رہاؤ۔ بخشش کرنے والے اور سبب بنانے والے سب کی پرورش کرنے والے پروردگار رحمان الرحیم اے اللہ اے انسانی عقل و سلیم سے بعید اے بیشمار و سعت کے مالک تو از خود کدا ہے او ر اعداد و شمار کی قید سے بعد ہے (1) اے مالکعالم سارے الم کی زندگی اور عالم کو زندگی بخشنے والے قادر قدرت قائنات ۔ اس خوف دور کرنے والے کی یاد دل میں بساؤ۔ اے مالک اعضائے جسمانی اے مالک زمین و عالم اے نجات دہندہ تو ہر جائی ہے (2) اے مہربان تو ہی بزرگان دین پیامبر قاصدان الہٰی یا بزرگان قوم کو نجات دینے والا ہے ۔ سب کے دلوں کا مالک اور منصف ہے قرآن اور مذہبی یا ذہنی کتابوں سے علیحدہ ہے (3) چشمہ رحمت خود ہی نرائن یا دینی کتابوں سے علیحدہ ہے (3) چشمہ رحمت خود ہی نرائن ہے اور خود ہی نر سنگھ وہ ہی دلمیں بستا ہے اور ہر دل کو ہے اسکا آسرا جو سب جگہ بس رہا ہے وہی ہے واسد یو ۔ لہذا اسکا کھیل بیان سے باہر ہے (4) اے کار ساز عالم کرتار کرم و عنایت فرما عبادت و ریاضت عنایت کراے عالم کے پیدا کرنے والے اے نانک بتادے ۔ مرشد نے یہ وہم وگمان مٹا دیا ہے ۔ ایک ہی اللہ اور ایک ہی ہے پار برہم۔

رامکلیِمہلا੫॥
کوٹِجنمکےبِنسےپاپ॥
ہرِہرِجپتناہیِسنّتاپ॥
گُرکےچرنکملمنِۄسے॥
مہابِکارتنتےسبھِنسے॥੧॥
گوپالکوجسُگاءُپ٘رانھیِ॥
اکتھکتھاساچیِپ٘ربھپوُرنجوتیِجوتِسمانھیِ॥੧॥رہاءُ॥
ت٘رِسنابھوُکھسبھناسیِ॥
سنّتپ٘رسادِجپِیاابِناسیِ॥
ریَنِدِنسُپ٘ربھسیۄکمانیِ॥
ہرِمِلنھےَکیِایہنیِسانیِ॥੨॥
مِٹےجنّجالہوۓپ٘ربھدئِیال॥
گُرکادرسنُدیکھِنِہال॥
پراپوُربلاکرمُبنھِآئِیا॥
ہرِکےگُنھنِترسناگائِیا॥੩॥
ہرِکےسنّتسداپرۄانھُ॥
سنّتجنامستکِنیِسانھُ॥
داسکیِرینھُپاۓجےکوءِ॥
نانکتِسکیِپرمگتِہوءِ॥੪॥੩੫॥੪੬॥
لفظی معنی:
کوٹ جنم ۔ کروڑوں جنم مراد دیرینہ ۔ پاپ۔ گناہ ۔ ونسے ۔ مٹے ۔ سنتاپ ۔ اندرونی عذاب۔ بکار ۔ برائیاں۔ نسے ۔ دور ہوئیں۔ (1) جس ۔ حمد۔ تعریف۔ پرانی ۔ اے انسان ۔ اکتھ کتھا ۔ ایسی کہانی جو بیان نہ ہو سکے ۔ ساچی۔ سڈیوی ۔ پورن ۔ کامل۔ جوتی جوت ۔ نور میں نور۔ سمانی ۔ ملجانے والی (1) رہاؤ۔ ترشنا۔ خواہشات کی پیاس ۔ بھکھ ۔ بھوک۔ ناسی ۔ مٹی ۔ ابناسی ۔ لافناہ ۔ رین ۔ دنس ۔ روز و شب۔ دن رات ۔ پربھ سیو ۔ خدمت ۔ خدا ۔ نیسانی ۔ علامات (2) جنجال ۔ پھندے ۔ غلامی ۔ دیال۔ مہربان ۔ نہال۔ خوش۔ پرا پوربلا۔ نہایت دیرینہ پہلے سے ۔ کرم ۔ اعمال۔ رسنا۔ زبان سے (3) ہر کے سنت۔ الہٰی روحانی رہبر و عاشقان خدا۔ پروان ۔ منظور ۔ قبول ۔ مستک ۔ پیشانی ۔ نیسان ۔ الہٰی منظوری کی شکل و صورت ۔ داس۔ خدمتگار خدا۔ رین ۔ دہول۔ پرم گت۔ سبھ سے بلند روحانی حالت۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان پروردگار خدا کی حمدوثناہ کیا کر خدا کی نا قابل بیان کہانی جو صدیوی کامل کخدا کے نور میں نور انسانی کو محو و مجذوب کر دیتی ہے (1) رہاو۔ اس سے دیرینہ کئے ہوئے گناہ عافو ہوجاتے ہیں مٹ جاتے ہیں۔ الہٰی یاد سے اندرونی عذاب نہیں رہتے قدم مرشد دل میں بستے ہیں بھاری برائیاں و بد کاریاں مٹ جاتی ہے (1) خواہشات کی بھوک پیاس مٹ جاتی ہے ۔ جو سنت کی رحمت سے جو لافناہ خدا کی ریاضت کرتا ہے اور روز و شب خدمت خدا کرتا ہے یہی الہٰی ملاپ کی نشانی ہے (2) خدا جب مہربان ہوتا ہے تو غلامی چلی جاتی ہے ۔ دیدار مرشد سے خوشی محسوس ہوتی ہے ان کے پہلے کئے ہوئے اعمال مددگار بنتے ہیں۔ وہ زبان سے ہمیشہ خدا کی حمدوثناہ کرتے ہیں (3) الہٰی عبادت و بندگی کرنے والے ہمیشہ قدرومنزلت پاتے ہیں۔ خادمان خدا روحانی رہبر سنتوں کی پیشانی نورانی ہوتی ہے جو الہٰی پروانگی کا نشان ہے ۔ اے نانک۔ ایسے خادمان خدا کے قدموں کی دہول حاصل ہو جائے تو اس کی بلند روحانی حالت ہوجاتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
درسنکءُجائیِئےَکُربانُ॥
چرنکملہِردےَدھرِدھِیانُ॥
دھوُرِسنّتنکیِمستکِلاءِ॥
جنمجنمکیِدُرمتِملُجاءِ॥੧॥
جِسُبھیٹتمِٹےَابھِمانُ॥
پارب٘رہمُسبھُندریِآۄےَکرِکِرپاپوُرنبھگۄان॥੧॥رہاءُ॥
گُرکیِکیِرتِجپیِئےَہرِناءُ॥
گُرکیِبھگتِسداگُنھگاءُ॥
گُرکیِسُرتِنِکٹِکرِجانُ॥
گُرکاسبدُستِکرِمانُ॥੨॥
گُربچنیِسمسرِسُکھدوُکھ॥
کدےنبِیاپےَت٘رِسنابھوُکھ॥
منِسنّتوکھُسبدِگُرراجے॥
جپِگوبِنّدُپڑدےسبھِکاجے॥੩॥
گُرُپرمیسرُگُرُگوۄِنّدُ॥
گُرُداتادئِیالبکھسِنّدُ॥
گُرچرنیِجاکامنُلاگا॥
نانکداستِسُپوُرنبھاگا॥੪॥੩੬॥੪੭॥
لفظی معنی:
چرننل۔ پائے پاک ۔ مستک ۔ پیشانی ۔ درمت۔ بد عقلی ۔ (1) ابھیمان۔ غرور۔ پار برہم۔ پار لگانے والا۔ پورن ۔ بھگوان ۔ کامل خدا (1) رہاؤ۔ کرت ۔ صفت۔ تعریف۔ہر ناؤ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت۔ بھگت ۔ پیار۔ پریم ۔ سرت ۔ ہوش۔ دھیان۔ نکٹ۔ نزدیک۔ سبد۔ کلام۔ ست ۔سچ صدیوی ۔ مان۔ سمجھ (2) سمسر۔ برابر۔ بیاپے ۔ بستی ۔ ترشنا بھوکھ ۔ خواہشات کی بھوک پیاس۔ سنتوکھ ۔ صبر۔ ( پڑوے ۔ ڈھانپتا ہے ) پڑوے سبھ کابے ۔ سب پردوں یارازوں کو ڈھانپتا ہے (3) گر پر میسرور۔ مرشد مانند خدا ہے ۔ گرداتا۔ مرشد دینے والا ہے ۔ دیال ۔ مہربان۔ بخشند ۔ بخشنے والا۔ پورن بھاگا۔ پوری قسمت والا۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے ملاپ سے غرور مٹ جائے دیدار خدا ہو جائے ۔ اے خدا ایسی کرم و عنایت کر فرما (1) رہاؤ۔ اس کے دیدار پر قربان جائیں اور اس کے قدموں کو دل میں بساؤ۔ اور دھیان کرؤ روحانی رہبروں کے قدموں کی دہول لگانے سے دیرینہ ناپاکیزگی روحانیت کی دور ہوجاتی ہے (1) جس کے ملاپ سے غرور مٹ جاتا ہے ۔ مرشد کی تعریف الہٰی نام سچ و حقیقت کی یاد و ریاض کرنی ہے ۔ الہٰی حمدوثناہ ہی خدمت مرشد ہے ۔ خدا کو نزدیک اور ساتھ سمجھنا مرش میں دھیان ہے ۔ کلام مرشد کو سچا صدیوی سمجھ (2) کلام مرشد بتاتے ہیں آرام و آسائش و عذاب کو برابر سمجھ ۔ کبھی خواہشات کی بھوک پیاس نہیں ہرتی ۔ دلمیں صبر پیدا ہوجاتا ہے اور کلام مرشد سے دل سیر ہوجاتا ہے الہٰی نام سچ و حقیقت سے پردے افشاں نہیں ہوتے ہر دو عالموں میں عزت و توقیر حاصل ہوتی ہے (3) مرشد خدا داتار مہربان بخشنہار کی ہی شکل وصورت ہے جس کی پائے مرشد سے محبت ہوجائے ۔ اے خادم نانک وہ بلند قسمت ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کِسُبھرۄاسےَبِچرہِبھۄن॥
موُڑمُگدھتیراسنّگیِکۄن॥
رامُسنّگیِتِسُگتِنہیِجانہِ॥
پنّچبٹۄارےسےمیِتکرِمانہِ॥੧॥
سوگھرُسیۄِجِتُاُدھرہِمیِت॥
گُنھگوۄِنّدرۄیِئہِدِنُراتیِسادھسنّگِکرِمنکیِپ٘ریِتِ॥੧॥رہاءُ॥
جنمُبِہانواہنّکارِارُۄادِ॥
ت٘رِپتِنآۄےَبِکھِیاسادِ॥
بھرمتبھرمتمہادُکھُپائِیا॥
تریِنجائیِدُترمائِیا॥੨॥
کامِنآۄےَسُکارکماۄےَ॥
آپِبیِجِآپےہیِکھاۄےَ॥
راکھنکءُدوُسرنہیِکوءِ॥
تءُنِسترےَجءُکِرپاہوءِ॥੩॥
پتِتپُنیِتپ٘ربھتیرونامُ॥
اپنےداسکءُکیِجےَدانُ॥
کرِکِرپاپ٘ربھگتِکرِمیریِ॥
سرنھِگہیِنانکپ٘ربھتیریِ॥੪॥੩੭॥੪੮॥
لفظی معنی:
بھرواسے ۔ سہارے ۔ بھروسے ۔ بچریہہ۔ گذارتا ہے ۔ بھون ۔ عالم ۔ دنیا۔ موڑھ مگدھ ۔ نادان۔ جاہل۔ سنگی ۔ ساتھی ۔ رام ۔ خدا ۔ اللہ ۔ گت ۔ حالت۔ پنچ بٹوارے ۔ روحانیت یا اخلاق کو لوٹتے والے لٹیرے ۔ میت ۔دوست (1) سیو ۔ خدمت کر ۔ ادھریہہ میت ۔ کامیابی حاصل ہو۔ گن گوبند۔ الہٰی صفت صلاح۔ رویہہ ۔ یادو ریاض ۔ سادھ سنگ ۔ صحبت و قربت پاکدامن ۔ من کی پریت۔ دلی پریم پیار سے ۔ (1) رہاؤ۔ جنم بہانو ۔ زندگی گذر رہی ہے ۔ اہنکار ۔ غرور۔ داد ۔ جھگڑے ۔ ترپت ۔ تسلی ۔ تسکین ۔ دکھواساد۔ زہریلی ۔ مائیا کے لطف سے ۔ بھرمت بھرمت ۔ بھٹکتے ہوئے ۔ مہادکھ ۔ بھاری عذاب۔ دترمائیا۔ اس دنیاوی مائیا پر عبور ممکن نہیں (2) کام نہ آوے ۔ بیفائدہ کام ۔ آپ بیج آپے ہی کھاوے ۔ جیسا بوتا ہے ویسا کاٹتا ہے ۔ راکھن ۔ برائے حفاظت تو ۔ تب ۔ نسترے ۔ کامیاب ہوتا ہے ۔ جو کرپا ہوئے ۔ جب خدا مہربان ہوتا ہے (3) پنت ۔ ناپاک ۔ بدا خلاق ۔ اخلاق سے گرا ہوا۔ پنیت ۔ پاک ۔ خوش اخلاق۔ پربھ تیرو نام۔ اے خدا تیرا نام یعنی سچ و حقیقت۔ داس۔ خدمتگار۔ دان۔ خیرات ۔ گت۔ بلند روحانی واخلاقی حالت۔ سرن گہی ۔ پناہ لی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دوست سوگھر اور مقام کی خدمت کر جس سے زندگی بہتر اور کامیاب ہو سکے ۔ ہر روز و شب خدا کی حمدوثناہ کر اور صحبت و قربت پادکامن سے ( سادھاں ) دلی محبت کر (1) رہاو۔ انسان کی زندگی غرور اور جھگروں میں گذر جاتی ہے ۔ دنیاوی دولت کی لزتوں میں کبھی تسلی نہیں ہوتی تسکین حاصل نہیں ہوتا بھٹکتے بھٹکتے بھاری عذاب پاتا ہے اس پر عبور حاصل کرنا بھاری دشوار اور محال ہے (2) بیکار بیفائہ کام کرتا ہے ۔ آخر جیسا بوتا ہے ویسا ہی کاٹتا ہے ۔ خدا کے بغیر بچانے والا دوسرا کوئی محافظ نہیں۔ کامیابی اسے ملتی ہے ۔ جس پر اس کی کرم وعنایت ہوتی ہے (3) اے خدا تیرا نام صدیوی سچا سچ و حقیقت بد اخلاق بد چلن ۔ اخلاق سے گرے ہوئے پاک نیک چلن بنانے والا اپنے خدمتگاروں کو خیرات میں دیتا ہے اے خدا اپنی کرم و عنایت سے میری روحانی واخلاقی حالت بلند اور بہتر بنا دے میں نانک نے آسرا اور سہارا لیا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
اِہلوکےسُکھُپائِیا॥
نہیِبھیٹتدھرمرائِیا॥
ہرِدرگہسوبھاۄنّت॥
پھُنِگربھِناہیِبسنّت॥੧॥
جانیِسنّتکیِمِت٘رائیِ॥
کرِکِرپادیِنوہرِناماپوُربِسنّجوگِمِلائیِ॥੧॥رہاءُ॥
گُرکےَچرنھِچِتُلاگا॥
دھنّنِدھنّنِسنّجوگُسبھاگا॥
سنّتکیِدھوُرِلاگیِمیرےَماتھے॥
کِلبِکھدُکھسگلےمیرےلاتھے॥੨॥
سادھکیِسچُٹہلکمانیِ॥
تبہوۓمنسُدھپرانیِ॥
جنکاسپھلدرسُڈیِٹھا॥
نامُپ٘ربھوُکاگھٹِگھٹِۄوُٹھا॥੩॥
مِٹانےسبھِکلِکلیس॥
جِستےاُپجےتِسُمہِپرۄیس॥
پ٘رگٹےآنوُپگد਼ۄِنّد॥
پ٘ربھپوُرےنانکبکھسِنّد॥੪॥੩੮॥੪੯॥
لفظی معنی:
ایہہ لو کے ۔ اس عالم میں۔ بھیٹت۔ ملاپ ۔ دھرم رائیا۔ الہٰی فرشتہ ۔ انصاف ۔ ہر درگیہہ ۔ الہٰی عدالت۔ سو بھاونت ۔ نیک شہرت ۔ گربھ ۔جنم (1) مترائی ۔ دوستی ۔ ہر نا ما ۔ الہٰی نام ۔ سچ وحقیقت پورب پہلے ۔ سنجوگ ۔ ملاپ (1) رہاؤ۔ گر کے چرن۔ مرشد کے قد موں سے ۔ چت لاگا۔ دل کو صحبت ہوئی ۔ سنجوگ ۔ ملاپ ۔ سبھاگا۔ خوش قسمت۔ سنت کی دہور۔ روحانی رہبر کے پاؤں کی خاک ۔ ماتھے پیشانی پر ۔ کل وکھ ۔ گناہ۔ دوش (2) سچ ۔ صدیوی ۔ ٹہل ۔ خدمت۔ سدھ ۔ پاک۔ پرانی ۔ انسان ۔ درس۔ دیدار۔ گھٹ گھٹ ۔ دوٹھا ۔ بسئیا۔ (3) مٹانے کل کلیس۔ جھگڑے و عزاب مٹانے ۔ اپجے پیدا ہوئے ۔ پر ویس ۔ مدغم۔ مجذوب۔ پرگٹے ۔ ظاہر ہوئے ۔ انوپ ۔ انوکھے ۔ بخسند۔ بخشنہار۔ بخشش کرنیوالا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
روحانی رہبر سنت کی دوستی کا پتہ چلا اپنی کرم و عنایت سے الہٰی نام سچ و حقیقت کی بخشش کی پہلے سے کئے ملاپ کی وجہ سے (1) رہاؤ۔ اس علام میں آرام و آسائش نصیب ہوئی الہٰی منصف سے واسطہ نہ پڑا۔ بارگاہ الہٰی میں عزت و حشمت حاصل ہوئی ۔ تناسخ میں نہیں جانا پڑا (1) دل میں مرشد کے قدموں سے دلچسپی ہوئی ملاپ تھا وہ مبارکباد کا مستحق ۔ روحانی رہبر سنت کی دہول پیشانی پر لگی ۔ میرے تمام عذاب اور گناہ عافو ہو گئے (2) پادکامن سادہو کی خدمت سچی صدیوی خدمت سے قلب پاک ہوجاتا ہے ۔ جس نے خادم خدا کا دیدار کامیابی سے کیا اس کے دل میں الہٰی نام سچ و حقیقت بس گئی (3) اے نانک سارے جھگڑے اور عذاب مٹ جاتے ہیں۔ جس خدا نے پیدا کیا ہے اسی میں ملجاتے ہیں وہ بخشنہار انوکھا نرالا خدا ظاہر ہوجاتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
گئوُکءُچارےساردوُلُ॥
کئُڈیِکالکھہوُیاموُلُ॥
بکریِکءُہستیِپ٘رتِپالے॥
اپناپ٘ربھُندرِنِہالے॥੧॥
ک٘رِپانِدھانپ٘ریِتمپ٘ربھمیرے॥
برنِنساکءُبہُگُنتیرے॥੧॥رہاءُ॥
دیِستماسُنکھاءِبِلائیِ॥
مہاکسابِچھُریِسٹِپائیِ॥
کرنھہارپ٘ربھُہِردےَۄوُٹھا॥
پھاتھیِمچھُلیِکاجالاتوُٹا॥੨॥
سوُکےکاسٹہرےچلوُل॥
اوُچےَتھلِپھوُلےکملانوُپ॥
اگنِنِۄاریِستِگُردیۄ॥
سیۄکُاپنیِلائِئوسیۄ॥੩॥
اکِرتگھنھاکاکرےاُدھارُ॥
پ٘ربھُمیراہےَسدادئِیارُ॥
سنّتجناکاسداسہائیِ॥
چرنکملنانکسرنھائیِ॥੪॥੩੯॥੫੦॥
لفظی معنی :
گھر ۔ گائے ۔ سار دول۔ شیر ۔ کوڈی ۔ جس کی ۔ کوئی قیمت یا وقت نہیں۔ ہستی ۔ ہاتھی ۔ پرتپالے ۔ پرورش کرئے ۔ ندر ہالے ۔نظر عنایت ۔ شفقت (1) کرپان دھان۔ کرم وعنایت کا خزانہ ۔ برن ۔ بیان ۔ (1) رہاؤ۔ ویست۔ جو نظر آرہا ہے ۔ بلائی بلی ۔ خواہشات۔ قصاب۔ قصائی ۔ مراد۔ غصہ ۔ کرنہار۔ کرنے والا۔ کارساز ۔ پھاتھی ۔ پھنسی ہوئی ۔ جالا۔ پھندہ (2) سوکے کاسٹ۔ سوکھی لکڑی ۔ ہرے چلول ۔ سر سبز ہوئی گل لالہ کی مانند۔ اوپے تھل۔ بند رتیلے ۔ ٹیلے پر ۔ مراد غرور و تکبر۔ مستقل مزاجی و سر خروئی مانند گل لالہ ۔ کمل انوپ ۔ انوکھا پھلو۔ اگن نواری ۔ خواہشات کی آگ دور کی ۔ سیوک اپنی لائیو سیو۔ خدمتگار کو اپنی خدمت میں جٹائیا (3) کرت گھنا۔ نا شکرے ۔ احسان نہ ماننے والا۔ احسان فراموش۔ ادھار۔ کامیاب ۔ دیار ۔ دیال۔ مہربان۔ سنت جنا۔ خادم خدا روحانی رہبر ۔ سہائی ۔ مددگار
ترجمہ معہ تشریح:
اے رحمان الرحیم مہربانیوں کے خزانے میرے پیارے خدا کے اوصاف بیان کرنے سے قاصر ہوں ۔ رہاؤ۔ گائے کو شیر چراتا ہے مغرور من اعضائےا حساس جسمانی کو اپنے قابو میں رکھتا ہے ۔ برایوں اور بدکاریوں میں مشغول من جس کی قدروقیمت نہ تھی اب بیشمار قدر و قیمت والا ہوگیا اب مغرور ذہن عاجزوں انکساروں کی پرورش کرنے لگ گیا جو پہلے ہاتھی کی مانند تھا (1) اب سامنے دکھائی دیتے گوشت کو بلی نہیں کھاتی مراد من نے اپنی خواہشات ختم کر دیں انسان کا رجوع دنیاوی نعمتوں کی طرف نہیں رہا ان کی طرف کوئی دلچپسی ہے ۔ قصاب کی مانند ظالم من ظلم سے پرہیز گار ہو گیا ہے ۔ اب پھنسی ہوئی مچھلی کی مانند دنیاوی الجھنوں میں محسور من کا پھندہ ٹوٹ گیا (2) جب ہوئی کرم و عنایت سوکھی لکڑی کی مانند پزمردہ دل گل لالہ کی مانند سر خرو اور لکڑی کی طرح سر سبز ہو گیا؛۔ اونچے ٹیلے مراد مغرور من ۔ کنول کے پھول طرح کھل گیا ۔ سچے مرشد نے غرور۔ حسد اور خواہشات کو جل رہی آگ بجھادی اور خدمتگار کو اپنی خدمت میں لگالیا (2) خدا رحمت و مہربانی کا چشمہ ہے اور نا شکری گذاروں احسان نہ ماننے والوں کو بھی کامیاب بناتا ہے اے نانک۔ روحانی رہبر سنتوں و خدائی خدمتگاروں کا مددگار ہے وہ ہمیشہ اس کے قدموں کے گرویدہ رہتے ہیں۔

رامکلیِمہلا੫॥
پنّچسِنّگھراکھےپ٘ربھمارِ॥
دسبِگھِیاڑیِلئیِنِۄارِ॥
تیِنِآۄرتکیِچوُکیِگھیر॥
سادھسنّگِچوُکےبھےَپھیر॥੧॥
سِمرِسِمرِجیِۄاگوۄِنّد॥
کرِکِرپاراکھِئوداسُاپناسداسداساچابکھسِنّد॥੧॥رہاءُ॥
داجھِگۓت٘رِنھپاپسُمیر॥
جپِجپِنامُپوُجےپ٘ربھپیَر॥
اندروُپپ٘رگٹِئوسبھتھانِ॥
پ٘ریمبھگتِجوریِسُکھمانِ॥੨॥
ساگرُترِئوباچھرکھوج॥
کھیدُنپائِئونہپھُنِروج॥
سِنّدھُسمائِئوگھٹُکےماہِ॥
کرنھہارکءُکِچھُاچرجُناہِ॥੩॥
جءُچھوُٹءُتءُجاءِپئِیال॥
جءُکاڈھِئوتءُندرِنِہال॥
پاپپُنّنہمرےَۄسِناہِ॥
رسکِرسکِنانکگُنھگاہِ॥੪॥੪੦॥੫੧॥
لفظی معنی :
پنج سنگھ ۔ پانچ شیر ۔ مراد پانچ احساسات اخلاق دشمن ۔ کام ۔ کرودھ ۔ لوبھ ۔ موہ اہنکار۔ بگھیاڑی ۔ اعضا۔ نوار۔ دور کئے ۔ تین آورت ۔ تین اوصاف کا بھنور۔ مراد رجو ۔ ستو ۔ تمو کا بھنور۔ گھمن گھیر ۔ بھے پھیر۔ خوف اور تناسخ (1) سمر سمر ۔ یادوریاض ۔ جیو ۔ زندہ ہوں۔ بخسند۔ بخشنے والے (1) رہاؤ۔ واجھ گئے ۔ جل گئے ۔ ترن پاپ سمیر ۔ پہاڑ جتنے بڑھے گھاس کے تنکے ۔ پوجے ۔ پرستش ۔ پر گٹیو ۔ ظہور پذیر ہوئے ۔ سبھ تھان۔ سب جگہ ۔ پریم بھگت جوری سکھ ۔ مان ۔ عبادت و بندگی میں دل لگا یہی سکھ سمجھ (2) ساگر ۔ سمندر باچھر کھوج ۔ بچھڑے کے پاؤں کے نشان کی تلاش کرکے ۔ کھید ۔ افسوس ۔ فن ۔ دوبارہ ۔ روج ۔ غم ۔ افسوس ۔ فکر ۔ سندھ ۔ سمندر۔ گھٹکے ماہے ۔ چھوٹےس ے گھڑے میں۔ کرنہار۔ کار ساز ۔ کرنے والے ۔ اچرج ۔ انوکھی ۔ نرالی (3) پیال۔ پاتال ۔ ندر نہال۔ نو مکمل خوش۔ پاپ پن۔ گنا و ثواب۔ وس۔ تابع ۔ زیر قوت ۔ رسک ۔ مزے لے لے کر ۔ گن گاہے ۔ صفت صلاح کرے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
میں خدا کی یادوریاض سے روحانی و اخلاقی طور پر زندہ ہوں۔ خدا اپنے خدمتگاروں کو اپنی کرم و عنایت سے حفاظت کرتا ہے وہ صدیوی بخشنے والا ہے ۔ (1)ر ہاؤ۔ خدا نے پانچوں شیر کی مانند طاقتور ظالم احساسات بد کو ختم کر دیا ۔ دس اعضا کے تاثرات کو بھی مٹا دیا اور دنیاوی دولت کے تینوں اوصاف ۔ رجو ۔ ستو ۔ طمو کے بھنور سے بھی نکال دیا ۔ صحبت و قربت پاکدامن سے خوف و تناسخ مٹ گیا (1)گناہوں کے سمیر پہاڑ جتنے انبار جل گئے ہیں۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کی یادوریاض سے اس کی پرستش کرتا ہے تو اس کے قدموں کی جب تو پر سکون خدا کو ہر جگہ دیدار پاتا ہے اس کے پریم پیار میں جب اپنا دھیان لگاتا ہے (2) اس دنیاوی سمندر کو اس طرح سے عبور کیا جاسکتا ہے جیسے کسی بچھڑے کے پاوں کے نشانات پر چلنے سے ۔ نہ اُس پر کسی عذاب نہ غمگینی اور خدا اس کے دل میں اس طرح سے بس جاتا ہےس مندر گھڑے میں بند ہو جائے کار ساز کرتار کے لئے یہ کوئی انوکھی اور نرالی بات نہیں ہے (3) جب دامن خدا کسی کے ہاتھ سے چھوٹ جاتا ہے تو وہ روحانیت و اخلاق کی پستی کے گھڑے میں ڈوب جاتا ہے ۔ جب خدا اُسے اس گڑھے سے نکال لیتا ہے تو الہٰی نگاہ شفقت سے دل و جان سے شگفتہ ہوجاتا ہے ۔ اے نانک۔ نیکی و بدی گناہ و ثواب انسان کی طاقت میں نہیں اے نانک پر لطف انداز سے حمدوثناہ کرتے رہو۔

رامکلیِمہلا੫॥
ناتنُتیرانامنُتوہِ॥
مائِیاموہِبِیاپِیادھوہِ॥
کُدمکرےَگاڈرجِءُچھیل॥
اچِنّتُجالُکالُچک٘رُپیل॥੧॥
ہرِچرنکملسرناءِمنا॥
رامنامُجپِسنّگِسہائیِگُرمُکھِپاۄہِساچُدھنا॥੧॥رہاءُ॥
اوُنےکاجنہوۄتپوُرے॥
کامِک٘رودھِمدِسدہیِجھوُرے॥
کرےَبِکارجیِئرےکےَتائیِ॥
گاپھلسنّگِنتسوُیاجائیِ॥੨॥
دھرتدھوہانِکچھلجانےَ॥
کئُڈیِکئُڈیِکءُکھاکُسِرِچھانےَ॥
جِنِدیِیاتِسےَنچیتےَموُلِ॥
مِتھِیالوبھُناُترےَسوُلُ॥੩॥
پارب٘رہمجببھۓدئِیال॥
اِہُمنُہویاسادھرۄال॥
ہستکمللڑِلیِنولاءِ॥
نانکساچےَساچِسماءِ॥੪॥੪੧॥੫੨॥
لفظی معنی :
تن ۔ جسم۔ تو ہے ۔ تیرا۔ مائیا موہ ویاپیا۔ دنیاوی دولت کی محبت میں گرفتار ۔ دہو ۔ فریب۔ دہوکا۔ کدم ۔ کلول ۔ کھیل۔ گاڈر ۔ بھیڑ۔ چھیل۔ چھیلا۔ لیلا۔ اچنت۔ اچانک۔ جال کال ۔ موت کا پھندہ۔ چکر پیل۔ چکر چلا دیتا ہے (1) چرن کمل ۔ کمل کے پھول کی مانند پاوں۔ رام نام جپ ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت یاد کر ۔ سنگ سہائی۔ ساتھی و مددگار ۔ گورمکھ ۔ مرشد کے وسیلےس ے ۔ پاویہہ۔ ملتا ہے ۔ساچ دھنا۔ سچا صدیوی سرمایہ (1) رہاؤ۔ اونے ۔ ادہورے ۔ کاج ۔ کام ۔ پورے مکمل ۔ کام ۔ شہوت۔ کرودھ ۔ غصہ ۔ مد ۔ نشہ سدہی جھورے ۔ ہمیشہ پچھتاتا ہے ۔ بکار ۔ برائیاں۔ جیئر کے تانیں۔ زندگی کے لئے ۔ غافل سنگ۔ اے غفلت یا لاپورہی کرنے ولالے تیرے ساتھ۔ تسوا۔ رنی بھر۔ جائی ۔ جائیگا (2) دھرت ۔ دہوہ ۔ دغا بازی ۔ دہوکا ۔ فریب۔ چھل۔ دہوکا۔ کوڈی کوڈی ۔ پائی ۔ پائی کے لئے ۔ سر خاک چھانے ۔ بدنانی کا باعث۔ مول ۔ بالکل ہی ۔ متھیا لوبھ ۔ جھوٹا لالچ۔ اُترے سول۔ درد ۔ دور نہیں ہوتا (3) سادھ روال۔ سادہو کی دہول۔ ہست کمل ۔ پھول جیسے ہاتھوں سے ۔ لڑ نے والے ۔ اپنے دامن لگا لیتا ہے ۔ ساچے ساچ سمائے ۔ صدیوی سچے خدا میں مدغم و مجذوب ہوجاتا ہے ۔
ترجمہ
اے دل خدا کے پائے مقدس کی پناہ لے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کو یاد رکھ یہی تیرا ساتھی و مددگار ہوگا۔ مگر یہ نام کی صدیوی سچی دولت مرشد سے میسئر ہوگی (1)ر ہاؤ۔ اے انسان نہ یہ جسم تیرا ہے اور نہ ہی من تیرا ہے تو دنیاوی دولت کی محبت میں گرفتار ہے اور دہو کے میں ہے ۔ جیسے بھیڑ کا بچہ بھیڑ سے کھیلتا ہے اور کللولیں کرتا ہے مگر اتفاقاً موت کا پھندہ پڑ جاتا ہے اور موت اپنا چکر چلا دیتی ہے (1) انسان کے ادہورے کام کبھی مکمل نہیں ہوتے ۔ شہوت غصے اور نشے میں ملوچ انسان ہمیشہ پچھتاتا ہے زندگی گذارنے کے لئے برائیاں کرتا ہے ۔ مگر بوقت اخرت رتی بھر کوئی چیز ساتھ نہیں جاتی (2) پائی پائی کے لئے ایسے کام کرتا ہے جو بے عزتی کا باعث بنتے ہیں ۔ جس نے اسے بیشمار نعمتیں عنایت کی ہیں انہیں یاد نہیں کرتا ۔ جھوٹے لالچ کا درد کبھی دل سے دور نہیں ہوتا (3) جب خدا مہربان ہوتا ہے ۔ تو یہی من پاکدامن کے قدموں کی دہول ہوجاتا ہے اور وہ اسے اپنے پاک ہاتھوں سے اسے اپنا دامن پکڑا دیتا ہے ۔ اے نانک وہ صدیوی سچے خدا میں مدغم و مجذوب ہوجاتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
راجارامکیِسرنھاءِ॥
نِربھءُبھۓگوبِنّدگُنگاۄتسادھسنّگِدُکھُجاءِ॥੧॥رہاءُ॥
جاکےَرامُبسےَمنماہیِ॥
سوجنُدُترُپیکھتناہیِ॥
سگلےکاجسۄارےاپنے॥
ہرِہرِنامُرسننِتجپنے॥੧॥
جِسکےَمستکِہاتھُگُرُدھرےَ॥
سوداسُادیساکاہےکرےَ॥
جنممرنھکیِچوُکیِکانھِ॥
پوُرےَگُراوُپرِکُربانھ॥੨॥
گُرُپرمیسرُبھیٹِنِہال॥
سودرسنُپاۓجِسُہوءِدئِیالُ॥
پارب٘رہمُجِسُکِرپاکرےَ॥
سادھسنّگِسوبھۄجلُترےَ॥੩॥
انّم٘رِتُپیِۄہُسادھپِیارے॥
مُکھاوُجلساچےَدربارے॥
اندکرہُتجِسگلبِکار॥
نانکہرِجپِاُترہُپارِ॥੪॥੪੨॥੫੩॥
لفظی معنی :
راجہ رام ۔ شہنشاہ عالم ۔ سرنائے ۔ زیر پناہ ۔ نر بھو بھیئے ۔ بیخوف ہوئے ۔ گو بند گن گاوت۔ الہٰی حمدوچناہ کرکے ۔ سادھ سنگ ۔ پاکدامن کے ساتھ و صحبت سے ۔ دکھ جائے ۔ عذاب مٹ جاتا ہے (1) رہاؤ۔ دتر۔ نا قابل عبور۔ پیکھت ناہی نظر نہیں کرتا ۔ سگلے کاج ۔ سارے کام ۔ ہر ہر نام ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت ۔ رسن ۔ زبان (1) مستک ۔ پیشانی۔ اویسا۔ اندیشہ ۔ خوف۔ ڈر ۔ چوکی کان ۔ محتاجی ختم ہوئی ۔ پورے گر۔ کامل مرشد (2) گر پر میسر ۔ مرشد و خدا۔ بھیٹ ۔ ملاپ ۔ نہال۔ خوشی برتری و بلندی سے ۔ بھوجل۔ بھیانک سمندر۔ (3) انمرت ۔ آبحیات۔ ایسا پانی جس سے زندگی جاویداں طور پرا خلاقی و روحانی طور پر نیک چلن ہوجاتی ہے ۔ مکھ اجل۔ سر خرو۔ ساچے دربارے ۔ سچے صڈیوی خدا کی عدالت میں۔ سگل بکار۔ ساری برائیاں۔ اتریہہ پار ۔ کا میابی میسئر ہوتی ہے ۔
ترجمہ
جو زیر سایہ و آسرے خدا کے بستے ہیں وہ الہٰی حمدوثناہ کرکے اور صحبت و قربت پاکدامن میں رہ کر بیخوف ہوجاتی ہے ۔ اور عذاب مٹا لیتے ہیں (1) رہاؤ۔ جن کے دل میں بستا ہے خدا وہ دشوار گذاریوں کو نظر انداز کر دیتے ہیں اپنے کام سر انجام دیتے ہیں اورا لہٰی نام سچ و حقیقت زبان سے ہر روز کہتے ہیں (1) جس کی پیشانی پر مرشد کا امدادی ہاتھ ہو اسے خوف کس بات کا خوف ویراس کیوں کرتا ہے ۔ تناسخ کی محتاجی اس کی مٹ جاتی ہے ۔ قربان ہوں ایسے کامل مرشد پر (2) مرشد و خدا کے ملپا سے برتری و بلندی و خوشی نصیب ہوتی ہے ۔ مگر دیدار اسے ہی نصیب ہوتا ہے ۔ جس پر ہو مہربان خدا۔ جس پر کامیابیاں بخشنے والا خدا مہربان ہوتا ہے وہ پاکدامن کی صحبت و قربت سے زندگی کو کامیاب بنا لیتا ہے (3) اے پاکدامنوں آب حایت نوش کیجیئے پیار یو تاکہ سچے صدیوے خدا کی عدالت میں تمہارے چہرے خوشباش پاک اور سر خرو ہوں۔ برائیوں کو چھوڑ کر خوشیوں بھرا سکون حاصل ہو ۔ اے نانک۔ الہٰی یادوریاض سے کامیابی حاصل ہوتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
ایِٹ਼دھنتےبیَسنّترُبھاگےَ॥
ماٹیِکءُجلُدہدِستِیاگےَ॥
اوُپرِچرنتلےَآکاسُ॥
گھٹمہِسِنّدھُکیِئوپرگاسُ॥੧॥
ایَساسنّم٘رتھُہرِجیِءُآپِ॥
نِمکھنبِسرےَجیِءبھگتنکےَآٹھپہرمنتاکءُجاپِ॥੧॥رہاءُ॥
پ٘رتھمےماکھنُپاچھےَدوُدھُ॥
میَلوُکیِنوسابُنُسوُدھُ॥
بھےَتےنِربھءُڈرتاپھِرےَ॥
ہوݩدیِکءُانھہوݩدیِہِرےَ॥੨॥
دیہیِگُپتبِدیہیِدیِسےَ॥
سگلےساجِکرتجگدیِسےَ॥
ٹھگنھہارانھٹھگداٹھاگےَ॥
بِنُۄکھرپھِرِپھِرِاُٹھِلاگےَ॥੩॥
سنّتسبھامِلِکرہُبکھِیانھ॥
سِنّم٘رِتِساستبیدپُرانھ॥
ب٘رہمبیِچارُبیِچارےکوءِ॥
نانکتاکیِپرمگتِہوءِ॥੪॥੪੩॥੫੪॥
لفظی معنی :
ایندھن۔ جلانے والی ۔ لکڑیاں۔ بیسنتر ۔ آگ ۔ دیدس ۔ ہر طرف ۔ دس اطراف۔ گیاگے ۔ چھوڑے ۔ چرن۔ پاؤں۔ تلے ۔ نیچے ۔ آکاس۔ آسمان۔ گھٹ ۔ دل۔ سندھ ۔ سمندر۔ پر گاس۔ روشن۔ (1) سمرتھ ۔ با توفیق ۔ سنمکھ ۔ آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے ۔ جیئہ ۔ دل ۔ آٹھ پہر ۔ ہر وقت۔ جاپ ۔ یاد رکھ ۔ (1) رہاؤ۔ پرتھمے ۔ پہلے ۔ میلو ۔ ناپاک ۔ سودھ۔ شدھ ۔ پاک۔ بھے ۔ خوف۔ نر بھو۔ بیخوف۔ ہوندی ۔ ہستی ۔ انحوندی ۔ بلاوجود۔ ہرے ۔ چرائے (2) دیہی ۔ دیہہ والا آتما۔ گپت ۔ پوشیدہ ۔ بدیہی ۔ بلا آتما۔ جسم۔ ویسے ۔ ظاہر۔ سگلے ۔ سارے ۔ ساج ۔ پیدا کرکے ۔ جگدیسے ۔ مالک عالم ۔ ٹھگنہار۔ دہوکا دینے کی توفیق رکھنے والی مراد ونیاوی دولت ۔ ان ٹھگدا۔ جو دہوکے میں آنا نہیں چاہیئے ۔ وکھر ۔ سودا۔ سرمایہ ۔ مراد الہٰی نام سچ و حقیقت ۔ اُٹھ اُٹھ لاگے ۔ دوبارہ ۔ دنیاوی دولت کی طرف رجوع ہے (3) سنت سبھا۔ پار ساوں روحانی رہبروں میں۔ وکھیان ۔ خیال آرائی ۔ تبادلہ خیالات ۔ برہم وچار۔ الہٰی سمجھ وچارے ۔ جو ویچار کرتا ہے ۔ پرم گت ۔ بلند روحانی و اخلاقی رتبہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا اتنی بڑی قوتوں کا مالک ہے جو آنکھ جھپکنے کی مدت کے لئے عاشقان الہٰی کے دلوں سے بھی نہیں بھولتا اے دل اسے ہر وقت یاد کر (1) رہاؤ۔
جیسے لکڑی میں آگ موجود ہے مگر جلاتی نہیں مراد لکڑی سے آگ ہچکچاتی ہے جبکہ فوراً جلادیتی ہے ۔ پانی مٹی چھوڑ تا ہے ۔ زمین سمندر میں بھی ہے مگر غرقا ب نہیں کرتی ۔ شجر یا درخت کی جڑیں اوپر نہیں سر نیچے ۔ گھڑے میں سمندر بند ہے مراد خدا جو ایک ( ایک ) بھاری سمندر کی مانند ہے ۔ ایک ننھے سے دل میں ظہور پذیر ہے (1) پہلے ماکھن پیچھے دودھ ۔ پہلے دودھ ہوتا ہے بعد میں مکھن نکلتاہ ے ۔ مگر جس نے یہ عالمن پیدا کیا ہے پہلے موجود ہے جگت یا عالم بعد میں پیدا ہوتا ہے ۔ میلو کینو صابن سودھ ۔ خدا جانداروں کی پرورش کے لئے خون کود ودھ میں تبدیل کر دیتا ہے ۔ جیسے میلے کو صاحب سے شدھ یا صاف کیا جاتا ہے ۔ ( مگر خدا) جو بیخوف ہے اسکا ایک جز انسان یا جاندار خوف سے خوف کرتا ہے ۔ ہوند مراد وجود کو بیو جود فریب اور دہوکا فریب کرتی ہے ۔ مراد مائیا جسکا اپنا کوئی وجود نہیں انسان کو دہوکا دیتی ہے (2) جسم کا مالک آتمایا روح پوشیدہ ے ۔ جبکہ جسم ظاہر اور ظاہر ہے ۔ اس سارے عالم کو پیدا کرنے والا ہے ۔ مالک خدا۔ یہ دنیاوی دولت ہمیشہ انسان کو دہوکا فریب کرتی رہتی ہے ۔ اور الہٰی نام سچ و حقیقت سے بےب ہرہ انسان بار بار دنیاوی دولت میں دلچسپی لیتا ہے (3) پار ساؤں روحانی رہبروں سنتوں کے درمیان تبادلہ خیالات سمرتیوں شاشتروں ویدو پرانوں کی تشریح کرکے دیکھ لو اس دنیاوی دولت سے بچاو محال ہے ۔ جو کوئی سچے پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں الہٰی اوصاف کو ( سوچ ) سوچتا سمجھتا وچار کرتا ہے ۔ اے نانک۔ اسکی بلند ترین روحانی واخلاقی حالت ہوجاتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
جوتِسُبھاۄےَسوتھیِیا॥
سداسداہرِکیِسرنھائیِپ٘ربھبِنُناہیِآنبیِیا॥੧॥رہاءُ॥
پُتُکلت٘رُلکھِمیِدیِسےَاِنمہِکِچھوُنسنّگِلیِیا॥
بِکھےَٹھگئُریِکھاءِبھُلانامائِیامنّدرُتِیاگِگئِیا॥੧॥
نِنّداکرِکرِبہُتُۄِگوُتاگربھجونِمہِکِرتِپئِیا॥
پُربکمانھےچھوڈہِناہیِجمدوُتِگ٘راسِئومہابھئِیا॥੨॥
بولےَجھوُٹھُکماۄےَاۄرات٘رِسننبوُجھےَبہُتُہئِیا॥
اسادھروگُاُپجِیاسنّتدوُکھنِدیہبِناسیِمہاکھئِیا॥੩॥
جِنہِنِۄاجےتِنہیِساجےآپےکیِنےسنّتجئِیا॥
نانکداسکنّٹھِلاءِراکھےکرِکِرپاپارب٘رہممئِیا॥੪॥੪੪॥੫੫॥
لفظی معنی :
جو تس بھاوے ۔ جو وہ چاہتا ہے ۔ وہی ہوتا ہے ۔ آن بیا ۔ دوسرا کوئی (1) رہاؤ۔ کللتر ۔ عورت۔ لکھی ۔ سرمایہ ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ وکھے ٹھگوری ۔ دہوکا دینے والی بوٹی ۔ بھلانا ۔ گمراہ ۔ مندر تیاگ ۔ دیا ۔گ ھر بار چھوڑ دیا (1) نندا۔ بدگوئی ۔ وگوتا۔ ذلیل و خوار ہوا ۔ گربھ جون۔ تناسخ۔ کرت پئیا۔ اعمال کی مطابق۔ پرب ۔ کمانے ۔ پہلے کئے ہوئے اعمال۔ جمروت گرسیو ۔ فرشتہ موت نے پکڑ لیا (2) کماوے اور ۔ اعمال دوسرے ۔ ترسن ۔ پیاس۔ ساوھ ۔ روگ ۔ لاعلجا بیماری ۔ا پجیا۔ پیدا ہوا۔ سنت دوکھن ۔ پاکدامن روحانی رہبروں کی برائی کرنے ۔ دیہہ بناسی مہا کھئیا ۔ بھاری کھئی کی بیماری سے جسم ختم ہوجاتا ہے (3) جس نے انکو آداب و قدرو قیمت بخشی ہے اسی نے انکو زندگی بخشی ہے ۔ اور خو دیہ فتحیاب کرتا ہے ۔ اے نانک۔ خدا اپنی کرم و عنایت سے اپنے گلے لگا کر رکھتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا جو چاہتا ہے ہوتا ہے وہی ۔ ہمیشہ الہٰی پناہ میں رہو اس کے بغیر نہیں ایسی ہستی کوئی (1)ر ہاؤ۔ بیٹے ۔ عورت اور سرمایہ جو زیر نظر ہے ان میں سے کچھ بھی نہیں ساتھ جاتا۔ بدکاریوں اور بدا خلاقیوں سے گمراہ ہوکر آکر یہ دنیاوی دولت اور گھر بار چھوڑ کر اس جہاں سے رخصت ہوجاتا ہے (1) بغض و بدگوئی کرکے بہت ذلیل و خوار ہوتا ہے ۔ تناسخ مین پڑا رہتا ہے ۔ پہلے کئے ہوئے انسان کا پیچھا نہیں چھوڑتے اور فرشتہ موت جو بھاری خوفناک ہے اسے قابو کر لیتا ہے (2 ) جھوٹ بولتا ہے کہتا کچھ ہے اور اعمال کچھ اور ہیں۔ دنیاوی دولت کی خواہشات بجھتی نہیں ہمیشہ آہ و زاری پیار رہتی ہے ۔ روحانی رہبر سنتوں کی بدگوئی کرنے کی وجہ سے دنیاوی دولت کی لا علاج بیماری سے جسم ختم ہوجاتا ہے (3) خدا نے خود ہی اپنے خادم روحانی رہبروں فتو حات کا مالک بنائیا ہوتا ہے انہیں اسی خڈا نے پیدا کیا ہے جو انہیں قدرو منزلت بخشی ہے اے نانک۔ خدا خود اپنی کرم وعنایت سے اپنے خادموں کو اپنے گلے لگا کر رکھتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
ایَساپوُراگُردیءُسہائیِ॥
جاکاسِمرنُبِرتھانجائیِ॥੧॥رہاءُ॥
درسنُپیکھتہوءِنِہالُ॥
جاکیِدھوُرِکاٹےَجمجالُ॥
چرنکملبسےمیرےمنکے॥
کارجسۄارےسگلےتنکے॥੧॥
جاکےَمستکِراکھےَہاتھُ॥
پ٘ربھُمیرواناتھکوناتھُ॥
پتِتاُدھارنھُک٘رِپانِدھانُ॥
سداسداجائیِئےَکُربانُ॥੨॥
نِرملمنّتُدےءِجِسُدانُ॥
تجہِبِکاربِنسےَابھِمانُ॥
ایکُدھِیائیِئےَسادھکےَسنّگِ॥
پاپبِناسےنامکےَرنّگِ॥੩॥
گُرپرمیسُرسگلنِۄاس॥
گھٹِگھٹِرۄِرہِیاگُنھتاس॥
درسُدیہِدھارءُپ٘ربھآس॥
نِتنانکُچِتۄےَسچُارداسِ॥੪॥੪੫॥੫੬॥
لفظی معنی :
گر دیو ۔ کامل مرشد۔ سہائی ۔ مددگار ۔ سمرن ۔ یادوریاض ۔ برتھا بیکار۔ بیفائدہ ۔ (1) رہاؤ۔ درسن پیکھت ۔ دیدار کرتے ہی ۔ نہال۔ برتی و خوش نصیب ہوتی ہے ۔ دہور ۔ دہول ۔ خاک پا۔ جسم جال ۔ موت کا پھندہ ۔ چرن کمل۔ پھول جیسے پاک پاؤں ۔ من ۔د لمیں ۔کارج ۔ کام ۔س گلے ۔ سارے (1) مستک ۔ پیشنای ۔ ہاتھ ۔ امدادی ۔ ہاتھ ۔ اناتھ کوناتھ ۔ بے مالکوں کا مالک ۔ پتت ادھارن ۔ ناپاک ۔ بد اخلاق کو بچانے والا ۔ کر پاندھان۔ رحمان الرحیم ۔ مہربانیوں کا خزانہ (2) نرمل منت ۔ پاک و اعظ و سبق ۔ نصیحت ۔ دان خیرات۔ تجیہہ۔ چھوڑے ۔ بکار ۔ بیفائدہ کام ۔ ونسے ۔ مٹائے ۔ ابھیمان ۔ غرور۔ ایک دھیائے ۔ سادھ کے سنگ ۔ واحد خدا میں پاکدامن کی صحبت میںد ھیان لگائے ۔ پاپ ونسے ۔ گناہ مٹ جاتے ہیں۔ نام کے رنگ۔ سچ و حقیقت کے پریم پیار سے (2) مرشد و خدا سب میں بستا ہے ۔ گر پرمیسور سگل نواس گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ ۔د رس ۔ سبق۔ وھارو ۔ رکھتا ہوں۔ آس ۔ امید ۔ نت۔ ہر روز۔ چتو کے ۔د ل میں خیال کرتا ہے ۔ سچ ارداس ۔ صدیوی سچی عرض و گذارش۔
ترجمہ معہ تشریح:
کامل مرشد ایسا مددگار ہے جس کی یاد ور بیکار بیفائدہ نہیں جاتی ۔ (1)ر ہاؤ۔ اس کے دیدار سے دل و جان کھل جاتی ہے ۔ اس کی دہول روحانی موت کا پھندہ کاٹ دیتی ہے ۔ اس کے پاک قدم میرےد ل میں بستے ہیں۔ (1) جس کی پیشانی پر اپنا امدادی ہاتھ ٹکادیتا ہے ۔و ہ بے مالکوں ناتوانوں کا مالک ہے ۔ وہ رحمان الرحیم ہے مہربانیوں کا خزانہ ہے اور بد اخلاقوں بدکاروں اور چال چلن سے گرے ہوئے کو بچانے والا ہے ۔ ایسے مرشد پر قربان ہونا چاہیے (2) پاک سبق جیسے خیرات کرتا ہے وہ ربرائیاں اور غرور چھوڑ دیتا ہے ۔ صحبت پاک مرشد میں رہ کر خدا واحد میں دھیان لگاؤ ۔ گناہ مٹ جاتے ہیں الہٰی نام سچ و حقیقت کے پریم پیار سے (3) مرشد خدا سب میں بستا ہے اور اوصاف کا خزانہ ہر دل میں بستا ہے ۔ میرےد لمیں تیرے دیدار کی امید بندھی ہوئی مجھے دیدار دیجیئے نانک کی یہ عرض و گذارش ہے کہ سچے صدیوی خدا کی یاد کرتارہے ۔

راگُرامکلیِمہلا੫گھرُ੨دُپدے
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
گاۄہُرامکےگُنھگیِت॥
نامُجپتپرمسُکھُپائیِئےَآۄاگئُنھُمِٹےَمیرےمیِت॥੧॥رہاءُ॥
گُنھگاۄتہوۄتپرگاسُ॥
چرنکملمہِہوءِنِۄاسُ॥੧॥
سنّتسنّگتِمہِہوءِاُدھارُ॥
نانکبھۄجلُاُترسِپارِ॥੨॥੧॥੫੭॥
لفظی معنی :
آواگون ۔ تناسخ۔ میت ۔ دوست۔ پرگاس۔ ذہن روشن ۔ علمی روشنی ۔ نواس۔ ٹھکانہ ۔ سنت ۔ سنگت ۔ سحبت و قربت۔ عارفاں روحانی رہبر سنتوں ۔ ادھار ۔ کامیابی ۔ بھوجل۔ خوفناک بھیانک زندگی کا سمندر۔ اترس پار ۔ زندگی کامیاب ہوگی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کی حمدوچناہ کرؤ الہٰی نام سچ و حقیقت کی یادوریاض سے بھاری آرام و آسائش ملتی ہے ۔ اے دوست تناسخ مٹ جاتا ہے (1) رہاؤ۔ الہٰی حمدوثناہ سے علمی ذہن و روحانی روشنی ملتی ہے اور خدا میں بھروسا اور یقین پیدا ہوتا ہے (1) روحانی پاکدامنوں سنتوں کی صحبت و قربت میں زندگی کامیابی ہوجاتی ہے اے نانک اس زندگی کے خوفناک بھنور سے کامیابی سے عبور حاصل ہوجاتا ہے

رامکلیِمہلا੫॥
گُرُپوُرامیراگُرُپوُرا॥
رامنامُجپِسداسُہیلےسگلبِناسےروگکوُرا॥੧॥رہاءُ॥
ایکُارادھہُساچاسوءِ॥
جاکیِسرنِسداسُکھُہوءِ॥੧॥
نیِدسُہیلیِنامکیِلاگیِبھوُکھ॥
ہرِسِمرتبِنسےسبھدوُکھ॥੨॥
سہجِاننّدکرہُمیرےبھائیِ॥
گُرِپوُرےَسبھچِنّتمِٹائیِ॥੩॥
آٹھپہرپ٘ربھکاجپُجاپِ॥
نانکراکھاہویاآپِ॥੪॥੨॥੫੮॥
لفظی معنی :
سہیلے ۔ سکھی ۔ سگل ۔ سارے ۔ بناسے ۔ مناسے ۔ مٹائے ۔ کورا۔ جھوٹ (1) رہاؤ۔ ارادہو ۔ یاد وریاض کرؤ۔ سچا سوئے ۔و ہی ہے صدیوی سچا ۔ سرن ۔ پناہ (1) نیند سہیلی ۔ آرام دیہہ ۔ نیند۔ نام ۔ سچ و حقیقت۔ ہر سمرت۔ الہٰی یاد۔ ونسے ۔ مٹتے ہیں۔ سبھ دوکھ ۔ سارے عذاب و تکلیفات ۔ سہج آنند۔ روحانی سکون کا مزہ ۔ چنت ۔ فکر تشویوش۔ (3) آٹھ پہر۔ ہر وقت ۔ جپ جاپ ۔ یاد کر۔ رکھا۔ محافظ ۔ حفاظت کرنے والا۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا مرشد ایک کامل مرشد اور کامل انسان ہے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کی یادو ریاض سے انسان ہمیشہ آرام و آسائش پاتا ہے ۔ سارے جھوٹ کی بیماریاں مٹ جاتی ہے (1) رہاؤ۔ واحدا خدا کی جو صدیوی سچا ہے یاوریاض کرؤ جس کے زیر سایہ ہمیشہ سکھ ملتا ہے (1) اس سے آسان نیند سچ و حقیقت الہٰی نام سچے پیار پیدا ہوتا ہے ۔ اورا لہٰی یاد سے سارے دکھ مٹ جاتے ہیں (2) اے بھائی روحانی سکون کا لطف اُٹھاؤ۔ کامل مرشد ہر طرح تشویش اور فکر مٹا دیتا ہے (3) ہر وقت الہٰی عبادوت و ریاضت کرؤ ۔ اے نانک خدا اسکا خود محافظ ہے ۔

راگُرامکلیِمہلا੫پڑتالگھرُ੩
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
نرنرہنمسکارنّ॥
جلنتھلنبسُدھگگنایکایکنّکارنّ॥੧॥رہاءُ॥
ہرندھرنپُنپُنہکرن॥
نہگِرہنِرنّہارنّ॥੧॥
گنّبھیِردھیِرنامہیِراوُچموُچاپارنّ॥
کرنکیلگُنھامولنانکبلِہارنّ॥੨॥੧॥੫੯॥
لفظی معنی :
نر نریہہ۔ مردوں میں سے خاص مرد ۔ نمسکار ۔ سجدہ ہے اُسے ۔ سر جھکتا ہے اُسے ۔ جلن پانی میں ۔ تھکن ۔ صحرا میں۔ سُدھ ۔ زَمین ۔ پُر ۔ گگن ۔ آسمان۔ ایکنکار ۔ واحد خدا۔ (1) رہاؤ۔ ہرن ۔ مٹا دینے والا۔ دھرن ۔ پروردگار۔ پن پنیہہ۔ بار بار ۔ نیہہ گر یہہ۔ نہ گھر ہے ۔ نرہار۔ نہ کھاتا ہے (1) گنبھیر ۔ سنجیدہ ۔ دھیر ۔ مستقل مزاج ۔ نام ہیر ۔ نام ہیرا۔ الہٰی نام سچ و حقیقت ۔ بیش قیمت ہیرا ہے ۔ اوچ۔ اونچا۔موچ ۔ وڈا۔ اپار۔ اتنی وسعت والا کہ کوئیکنارہ نہیں۔ کیل۔ تماشے ۔ گن امول ۔ بیش قیمت اوصاف۔ بلہار۔ قربان ہوں۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہمیشہ خدا کو سجدہ کرتے رہو سر جھکاتے رہووہ پانی مراد سمندر صحرا زمین آسمان میں موجود ہے واحد خدا (1)ر ہاؤ۔ سب کو مٹا دینے والا پرورش کرنے والا پر وردگار بار بار پیدا کرنے والا نہ اسکا کوئی گھر ہے نہ اسے کھانے کی ضرورت ہے (1) وہ سب سےب لند ہستی سب سےبلند عظمت اور اعداد و شمار سے ہے باہر اتنی وسعت والا کہ کنار نہیں۔ کھیل تماشے کرتا ہے ۔ بیش قیمت اوصاف کا مالک نانک قربان ہے اس پر ۔

رامکلیِمہلا੫॥
روُپرنّگسُگنّدھبھوگتِیاگِچلےمائِیاچھلےکنِککامِنیِ॥੧॥رہاءُ॥
بھنّڈاردرباربکھربپیکھِلیِلامنُسدھارےَ॥
نہسنّگِگامنیِ॥੧॥
سُتکلت٘ربھ٘راتمیِتاُرجھِپرِئوبھرمِموہِئواِہبِرکھچھامنیِ॥
چرنکملسرننانکسُکھُسنّتبھاۄنیِ॥੨॥੨॥੬੦॥
لفظی معنی :
روپ ۔ خوبصورت شکل وصورت ۔ رنگ ۔ پریم پیار۔ سگند ۔ خوشبوئیں۔ تیاگ ۔ چھوڑ چلے ۔ بھوگ ۔ کھانے ۔ مائیا چھلے ۔ دنیاوی دولت کے ( دولت ) دھوکے میں۔ کنک ۔ سونا۔ کامنی ۔ عورت (1) رہاؤ۔ بھنڈار۔ خزانے ۔ دربھ ۔س رمایہ ۔ ارب کھرب۔ اتنا زیادہ سرمایہ بیشمار۔ پیکھ لیلا ۔ کھیل دیکھکر۔ من سدھارے ۔ من کو تسلی دیتا ہے ۔ نیہہ سنگ گامنی ۔ ساتھی نہیں جائیگی (1) ست بیٹے ۔ کللتر ۔ عورت۔ بھرات ۔ بھائی۔ میت۔ دوست۔ ارجھ پریو۔ بھول بھلیو ۔ مخمسے میں۔ بھرم موہیو۔ وہم وگمان کی محبت میں۔ ایہہ برکھ چھامنی ۔ یہ شجر کا سایہ ہے ۔ چرن کمل سرن پائے مقدس کی پناہ ۔ سکھ سنت بھاونی ۔ روحانی رہبر سنت چاہیے ہیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
خوبصورت شکل و صورت پریم پیار خوشبوئیں دنیاوی دولت کی گمراہی اور دہوکے مین سونا عورت کے مصارف چھوڑ کر چلے جاتے ہیں (1) رہاؤ۔ بیشمار دولت کے خزانے اربوں کھربوں کی تعداد میں سرمایہ اور موج میلے دیکھ کر تسکین پاتے ہیں ۔ دل خوش کرتے ہیں مگر ساتھ نہیں جاتے (1) بیٹے عورت بھائی دوست کی محبت میں گرفتار انسان پھنسا رہتا ہے ۔ مگر یہ سارا ایک شجر کا سایہ ہے ۔ اے نانک۔ الہٰی پناہ کا سکھ سنت روحانی رہبر اچھا مانتے ہیں۔

ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
راگُرامکلیِمہلا੯تِپدے॥
رےمناوٹلیہُہرِناما॥
جاکےَسِمرنِدُرمتِناسےَپاۄہِپدُنِربانا॥੧॥رہاءُ॥
بڈبھاگیِتِہجنکءُجانہُجوہرِکےگُنگاۄےَ॥
جنمجنمکےپاپکھوءِکےَپھُنِبیَکُنّٹھِسِدھاۄےَ॥੧॥
اجاملکءُانّتکالمہِنارائِنسُدھِآئیِ॥
جاںگتِکءُجوگیِسُرباچھتسوگتِچھِنمہِپائیِ॥੨॥
ناہِنگُنُناہِنکچھُبِدِیادھرمُکئُنُگجِکیِنا॥
نانکبِردُرامکادیکھہُابھےَدانُتِہدیِنا॥੩॥੧॥
لفظی معنی :
اوٹ ۔ آسرا ۔ ہر ناما۔ الہٰی نام سچ و حقیقت ۔ سمرت ۔ یاد ۔ کرنیے ۔ درمت ۔ بد عقلی ۔ نا سے ۔ مٹ جائے ۔ پدیز بانا ۔ وہ روحانی رتبہ جہاں خوہاشات اپنا تاثر ڈالنے سے قاصر ہوجاتی ہیں (1) رہاؤ ۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت ۔ فن ۔ پھر۔ بیکنٹھ ۔ سدھاوے ۔ بہشت چلا جائے (1) اجامل۔ ایک غریب برہمن جو ایک پیشہ ور عورت کے ساتھ رہتا تھا ۔ انت کال ۔ بوقت آخرت ۔ نارائن ۔خدا۔ سدھ ۔س مجھ ۔ جاں گت کو جو گیسر بانچھت ۔ جیسی حالت ۔ وڈے ودے جوگی چاہتے ہیں۔ وہ بلند روحانی حالت ۔ سوگت۔ ویسی حالت۔ چھن میہہ۔ پل بھر میں (2) گن ۔ وصف۔ بدیا۔ علم وہنر ۔ دھرم۔ نیک کام ۔ نیکی ۔ گج ۔ ہاتھی ۔ بردھ ۔ عادت ۔ ابھے ۔ دان۔ بیخوفی کی خیرات۔ تیہہ ۔ اسے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل الہٰی نام سچ و حقیقت کا آسرا لے جس کی یادوریاض سے بد عقلی مٹ جاتی ہے اور ایسا روحانی رتبہ حاصل ہوجاتا ہے ۔ جس میں خواہشات بے اثر ہوجاتی ہے ۔ اثر انداز نہیں رہتیں (1) رہاؤ۔ اےد ل جو الہٰی حمدوثناہ کرتا ہے اسے بلند قسمت سمجھو ۔ وہ دیرینہ گناہ مٹا کر پھر بہشت پاتا ہے (1) اجامل جو ایک پرانک کہانی کی مطابق جو بھگوت پران میں تحریر ہے ۔ ایک برہمن ایک پیشہ ور عورت کے ساتھ رہتا تھا جو قنوج کا رہنے والا تھا ۔ اس کے لڑکے کا نام نارائن تھا اس لئے اسکا نام لینے لگ گیا نام لینے سے خدا کو سمجھا اور نجا ت پائی ۔ جس روحانی رتبے کو بھاری جوگی چاہتے ہیں۔ وہی رتبہ اسے حاصل ہوا (2) اے نانک اے دل ہاتھی کی کہانی سچ ۔ بھاگوت پران میں تحریر ہے ۔ ایک گندھرب یا گانے والا کسی رشی کے صراف سے ہاتھی بن گیا ۔ اس ہاتھی کو ورن کے تالاب میں ایک تندوئے نے اپنی تندوں میں جکڑ لیا الہٰی یا د سے بچ نکلا۔ اس میں نہ کوئی وصف تھا نہ کوئی علم غرض یہ کہ نہ اسے مذہبی فرائض انجامد ہی مگر تاہم خدا نے اسے بیخوفی کا رتبہ عطا کیا۔

رامکلیِمہلا੯॥
سادھوکئُنجُگتِابکیِجےَ॥
جاتےدُرمتِسگلبِناسےَرامبھگتِمنُبھیِجےَ॥੧॥رہاءُ॥
منُمائِیامہِاُرجھِرہِئوہےَبوُجھےَنہکچھُگِیانا॥
کئُنُنامُجگُجاکےَسِمرےَپاۄےَپدُنِربانا॥੧॥
بھۓدئِیالک٘رِپالسنّتجنتباِہباتبتائیِ॥
سربدھرممانوتِہکیِۓجِہپ٘ربھکیِرتِگائیِ॥੨॥
رامنامُنرُنِسِباسُرمہِنِمکھایکاُرِدھارےَ॥
جمکوت٘راسُمِٹےَنانکتِہاپُنوجنمُسۄارےَ॥੩॥੨॥
لفظی معنی :
سادہو ۔ پاکدامنوں۔ گون جگت۔ کونسا طریقہ ۔ درمت ۔ بد عقلی ۔ رام بھگت۔ الہٰی محبت پیار و خدمت ۔ بھیجے ۔ متاثر ہو۔ (1)ر ہاؤ۔ ارجھ ۔ا لجھ ۔ گرفتار۔ گیانا۔ سمجھ ۔ کون نام۔ وہ کونسا نام ۔ جاکے سمرے ۔ جس کی یاد وریاض سے ۔ پدنر بانا۔ نجات حاصل ہو ۔ ہر طرح کی ذہنی و دنیاوی غلامی سے نجات حاصل ہو (1) دیال کرپال۔ مہربان۔ سرب دھرم۔ تمام انسانی و مذہبی فرائض۔ مانو ۔سمجھو (2) رام نام ۔ سچ و حقیقت جوصدیوی ہے ۔ نس باسر۔ دن رات ۔ روز و شب۔ نمکھ ایک اردھارے ۔ دلمیں بسائے ۔ تراس۔ خوف۔ سوارے ۔ درست کرلیتاہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا رسیدہ پاکدامن سنتہو کون سا طریقہ یا وسیلہ یا منصوبہ اختیار کیاجائے جس کے اختیار کرنے سے انسان کے دل و دماغ اور ذہن سے بد عقلی ختم ہوجائے مٹ جائے ۔ انسان الہٰی یادوریاض میں محو ومجذوب ہوجائے (1) رہاؤ۔
دل دنیاوی دولت کی دستیابی اور محبت میں گرفتا اور اسے اسکے علم کی کچھ سمجھ نہیں کہ وہ کونسا نام ہے جس کے یادوریاض سے دنیا بغیر خواہشات روحانی حالات حاصل کر لیتا ہے ۔ بلند روحانی رتبہ جب پاتا ہے (1) خدا رسیدہ خادم خدا سنت مہربان ہوتے ہیں۔ تو انہوں نے سبق دیا ہے جس نے الہٰی حمدوثناہ صفت و صلاح کرتا ہے اس نے ہر طرح کے انسانی و مزہبی فرائض ادا کر دیئے (2)
جو انسان روز وشب میں ایک لمحہ بھر کے لئے آنکھ جھپکنے کے عرصے میں واحدا خدا دل میں بساتاہے ۔ وہ زندگی کے سفر کا سراط مستقیم پالیتا ہے ۔ موت روحانی کا خوف دور کر لیتا ہے ۔ تب اے نانک اپنی زندگی کو درست بنا لیتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੯॥
پ٘رانیِنارائِنسُدھِلیہِ॥
چھِنُچھِنُائُدھگھٹےَنِسِباسُرب٘رِتھاجاتُہےَدیہ॥੧॥رہاءُ॥
ترناپوبِکھِئنسِءُکھوئِئوبالپنُاگِیانا॥
بِردھِبھئِئواجہوُنہیِسمجھےَکئُنکُمتِاُرجھانا॥੧॥
مانسجنمُدیِئوجِہٹھاکُرِسوتےَکِءُبِسرائِئو॥
مُکتُہوتنرجاکےَسِمرےَنِمکھنتاکءُگائِئو॥੨॥
مائِیاکومدُکہاکرتُہےَسنّگِنکاہوُجائیِ॥
نانکُکہتُچیتِچِنّتامنِہوءِہےَانّتِسہائیِ॥੩॥੩॥੮੧॥
لفظی معنی :
پرانی ۔ اے انسان ۔ نارائن سدھ لیہو ۔ خدا کا دھیان کر۔ چھن چھن ۔ پل پل ۔ اودھ گھٹے ۔عمر کم ہو رہی ہے ۔ نس بسر۔ روز و شب۔ برتھا۔ بیفائدہ ۔ بیکار (1) رہاؤ۔ ترناپو ۔ جوانی ۔ وکھیئن سیؤ۔ بدکاریوں۔ کھیویؤ۔ بر باد کی ۔ بالپن ۔ بچپن ۔ اگیانا۔ لا علمی ۔ بے سمجھی ۔ بردھ ۔ بڑھاپا۔ سوجھیو نہیں۔ سمجھ نہیں اتی ۔ کمت ۔ کم عقلی ۔ گمراہی ۔ ارجھانا۔ الجھانا۔ گمراہ (1) مانس جنم۔ انسانی زندگی ۔ وسرایو۔ بھلا رکھا ہے ۔ مکت ۔ آزاد۔ نمکھ ۔ آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے (2) مد ۔ نشے ۔ کاہو سنگ نہ جائی ۔ کسی کے ساتھ نہیں جاتی ۔ چیت ۔ یاد کر ۔ چنتامن ۔ اس قیمتی رتن جو ہر خواہش پوری کرتا ہے ۔ مراد خدا ہوئے ہے انت سہائی۔ جو بوقت آخر مددگار ہوتا ہے ۔
رامکلیِمہلا੧اسٹپدیِیا
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
سوئیِچنّدُچڑہِسےتارےسوئیِدِنیِئرُتپترہےَ॥
سادھرتیِسوپئُنھُجھُلارےجُگجیِءکھیلےتھاۄکیَسے॥੧॥
جیِۄنتلبنِۄارِ॥
ہوۄےَپرۄانھاکرہِدھِگنْانھاکلِلکھنھۄیِچارِ॥੧॥رہاءُ॥
کِتےَدیسِنآئِیاسُنھیِئےَتیِرتھپاسِنبیَٹھا॥
داتادانُکرےتہناہیِمہلاُسارِنبیَٹھا॥੨॥
جےکوستُکرےسوچھیِجےَتپگھرِتپُنہوئیِ॥
جےکوناءُلۓبدناۄیِکلِکےلکھنھایئیِ॥੩॥
جِسُسِکداریِتِسہِکھُیاریِچاکرکیہےڈرنھا॥
جاسِکدارےَپۄےَجنّجیِریِتاچاکرہتھہُمرنھا॥੪॥
آکھُگُنھاکلِآئیِئےَ॥
تِہُجُگکیرارہِیاتپاۄسُجےگُنھدیہِتپائیِئےَ॥੧॥رہاءُ॥
کلِکلۄالیِسرانِبیڑیِکاجیِک٘رِسناہویا॥
بانھیِب٘رہمابیدُاتھربنھُکرنھیِکیِرتِلہِیا॥੫॥
پتِۄِنھُپوُجاستۄِنھُسنّجمُجتۄِنھُکاہےجنیئوُ॥
ناۄہُدھوۄہُتِلکُچڑاۄہُسُچۄِنھُسوچنہوئیِ॥੬॥
کلِپرۄانھُکتیبکُرانھُ॥
پوتھیِپنّڈِترہےپُرانھ॥
نانکناءُبھئِیارہمانھُ॥
کرِکرتاتوُایکوجانھُ॥੭॥
نانکنامُمِلےَۄڈِیائیِایدوُاُپرِکرمُنہیِ॥
جےگھرِہودےَمنّگنھِجائیِئےَپھِرِاولامامِلےَتہیِ॥੮॥੧॥
لفظی معنی :
سوئی ۔ ذہن۔ ونیئر ۔ سورج ۔ تپت رہے ۔ چمکتا اور گرمی دیتا ہے ۔ سادھرتی۔ وہی زمین ۔ سویون جھلا رے ۔ ہو اکے جھونکے ۔ جگ جیئہ کھیلے ۔ زمانہ کے تاثرات ۔ انسانوں پر ۔ تھا و کیسے ۔ کس طرح سے ٹھکانوں پر (1) جیون ۔ زندگی ۔قلب ۔ ضرورت ۔ خواہش۔ نوار ۔ دور کر ۔ پروانا۔ منظور۔ کرےدھگانا ۔ روز زبردستی ۔ لکھن ۔ نشانی ۔ وچار۔ سمجھ (1) رہاؤ۔ دیس ۔ ملک ۔ تیرتھ ۔ز یارت گاہ ۔ دان۔ خیرات۔ تیہہ۔ وہاں۔ محل۔ مکان ۔ اسار۔ بنا کر (2) ست کرئے ۔ بلند اخلاق۔ بلند چال چلن ۔سو چھیجے ۔ لوگوں کی نگاہ میں گرتا ہے ۔ تپ گھر ت پ نہ ہوئی ۔ جس کے دل میں تپسیا ہے مگر تپسوی نہیں۔ ناو۔ سچ و حق حقیقت الہٰی نام لیتا ہے ۔ تو بد نام ہوتا ہے ۔ کل کلجگ کی ہے یہ نشانی ۔کل کے ( لچھ لکھن ایئی (3) سکداری سرواری ۔ چوہدر۔ خواری ۔ ذلالت ۔ کیہے ۔ کس لئے ۔ ڈرنا۔ کوف۔ زنجیری ۔ طوق۔ چاکر ۔ نوکر (4) آکھ گنا۔ صفت کر اوصاف کی ۔ کل آییئے ۔کلجگ آگیا ہے ۔ تہو ۔ تینون زمانوں ۔ رہیا ۔ تپاوس۔ انصاف ختم ہوا۔ گن ۔ وسف (1) رہاؤ۔ کل ۔ کلجگ ۔ کلوالی ۔ جھگرے والی ۔ سرا۔ شرع۔ سرماد ۔اسلامی مذہبی قانون ۔ نبیڑی ۔ فیصلہ کرنے والی ۔ کاجی ۔ قاضی ۔ کر سنا۔ سیاہ دل ۔ رشوت خور۔ کرنی ۔ اعمال۔ اخلاق ۔کرت ۔ صفت صلاح۔ حمدوثناہ ۔ لہیا ۔ ختم ہوئی (5) پت ۔ عزت۔ پوجا۔ پرستش۔ ست ۔ سچ ۔ بلند اخلاق ۔ سنجم۔ پرہیز گاری ۔ جت ۔ شہوت پر ضبط۔ کاہے ۔ کیوں۔ سچ ۔ سچا اخلاق۔ پاکیزگی ۔ سوچ ۔ پاکیزگی (6) پروان۔ منظور۔ قبول۔ کیب ۔ مغربی مذہبی کتابیں اور قرآن۔ پنڈتوں کی پران وغیرہ کتابوں کی قدر جاتی رہی ۔ ناؤ بھیا رحمان۔ خدا کا نام رحمان ہو گیا ۔ کر کرتا تو ایکو جان۔ کرنے والے کرتار کا رساز کو واحد یا وہی سمجھ (7) وڈیائی ۔ عظمت و حشمت ۔ ہدو ۔ اُپراس سے بلند ۔ کرم ۔ بخشش۔ الا ماگلہ ۔ شکوہ ۔ تہی ۔ وہاں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان زندگی کی ضرورتیں اور خود غرضی مٹا۔ زور جبر ظلم کو منظوری یا قبولیت ہی کلجگ کی نشانی ہے (1)رہائی ۔ وہی چاند اور ہیں تارے وہی سورج اپنی تپش و چمک دیتا ہے وہی ہے زمین اور ہوا کے جھونکے ۔ لہذا یہ بات قابل قبول نہیں۔ کہ یگ تے تاثرات انسانی عادات پر پڑتے ہیں (1) نہ یہ سنا ہے کہ کلجگ پھلاں ملک میں آئیا ہے ۔ نہ کسی زیارت گاہ پر بیٹھا ہے ۔ کسی نے دیکھا ہے ۔ نہ جہاں کہیں سخی خیرات دے رہا ہے وہاں بیٹھا ہے نہ اس نے کہیں بنا کر مکان بیٹھا ہے (2) بلند اخلاق لوگوں کی نظروں میں گرتا ہے اگر کوئی تپسوی ہونے کا دعوے کرتا ہے تو اس کے غصے اس کے زیر ضبط نہیں جو کوئی الہٰی نام سچ و حقیقت اپناتا اور یادوریاض کرتا ہے تو لوگ اس کو بد نام کرتے ہیں یہی کلجگ کی نشانی ہے (3) جسے دوسورں پر سبقت و سرداری حاصل ہوتی ہے وہی ذلیل و خوار ہوتا ہے جو نوکریا خدمتگار ہے اس خوف کیسا ہے جب سردار کے گلے میں طوق پڑتا ہے تو وہ نوکروں کے ہاتھو مرتا ہے (4)
صفت صلاح کر خواہ کلجگ آگیا ہے تینوں زمانوں کے تاثرات ختم ہوگئے ہیں اے خدا اوصاف عنایت کر بخشش کر (1)ر ہاؤ۔ کلجگ یہ ہے کہ اس زمانے میں جھگڑے شرعی اسلامی قانونی کی مطابق فیصلے ہوتے ہیں اور قاضی یا منصف رشوت خور ہوگئے ہیں۔ کلام برہما اور اتھرون وید بلند اخلاق الہٰی حمدوثناہ ختم ہوگئے ہیں (5) خدا کو بھلا کر دیو تاؤں کی پرستش سچ اور حقیقت کے بغیر پرہیز گاری شہوت پر ضبط کے بغیر جنجو کا کیا مطلب کیا فائدہ ۔ خواہ زیارت گاہوں پر زیارت کرؤ غسل کرؤ جسمانی صفائی کرؤ پیشانی پر تلک بھی لگاؤ مگر پاک اخلاق و چال چلن کے بغیر یہ بیرونی پاکیزگی کی کوئی قدرو قیمت اور حقیقی پاکیزگی نہیں (6) مغربی مذہبی کتابوں اور قرآن کو ہی مقبولیت حاصل ہے ۔ پنڈتوں کی مذہبی کتابیں پران بے اثر ہوگئے ہیں۔ اے نانک۔ خدا کا نام رحمان ہو گیا ہے ۔ کرنے والے کرتار کار ساز خدا کو ایک ہی سمجھ (7) اے نانک۔ الہٰی نام سچ و حقیقت سے ہی عظمت و حشمت حاصل ہوتی ہے ۔ اس سے اعلے نیک اچھا کوئی اعمال نہیں ہے اگر خدا دلمیں بستا ہو مگر دوسروں سے مانگنے جاو تو یہ گناہ و گلہ شکوہ اس پر عائد ہوتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੧॥
جگُپربودھہِمڑیِبدھاۄہِ॥
آسنھُتِیاگِکاہےسچُپاۄہِ॥
ممتاموہُکامنھِہِتکاریِ॥
ناائُدھوُتیِناسنّساریِ॥੧॥
جوگیِبیَسِرہہُدُبِدھادُکھُبھاگےَ॥
گھرِگھرِماگتلاجنلاگےَ॥੧॥رہاءُ॥
گاۄہِگیِتنچیِنہِآپُ॥
کِءُلاگیِنِۄرےَپرتاپُ॥
گُرکےَسبدِرچےَمنبھاءِ॥
بھِکھِیاسہجۄیِچاریِکھاءِ॥੨॥
بھسمچڑاءِکرہِپاکھنّڈُ॥
مائِیاموہِسہہِجمڈنّڈُ॥
پھوُٹےَکھاپرُبھیِکھنبھاءِ॥
بنّدھنِبادھِیاآۄےَجاءِ॥੩॥
بِنّدُنراکھہِجتیِکہاۄہِ॥
مائیِماگتت٘رےَلوبھاۄہِ॥
نِردئِیانہیِجوتِاُجالا॥
بوُڈتبوُڈےسربجنّجالا॥੪॥
بھیکھکرہِکھِنّتھابہُتھٹوُیا॥
جھوُٹھوکھیلُکھیلےَبہُنٹوُیا॥
انّترِاگنِچِنّتابہُجارے॥
ۄِنھُکرماکیَسےاُترسِپارے॥੫॥
مُنّد٘راپھٹکبنائیِکانِ॥
مُکتِنہیِبِدِیابِگِیانِ॥
جِہۄااِنّد٘ریِسادِلد਼بھانا॥
پسوُبھۓنہیِمِٹےَنِسانا॥੬॥
ت٘رِبِدھِلوگات٘رِبِدھِجوگا॥
سبدُۄیِچارےَچوُکسِسوگا॥
اوُجلُساچُسُسبدُہوءِ॥
جوگیِجُگتِۄیِچارےسوءِ॥੭॥
تُجھپہِنءُنِدھِتوُکرنھےَجوگُ॥
تھاپِاُتھاپےکرےسُہوگُ॥
جتُستُسنّجمُسچُسُچیِتُ॥
نانکجوگیِت٘رِبھۄنھمیِتُ॥੮॥੨॥
لفظی معنی:
جگ پریودیہہ ۔ لوگوں کو نصیحتیں کرتا ہے ۔ مڑی بدھا ویہہ ۔ پیٹ یا جسم کی پرورش کرکے بڑھاتا ہے ۔ آسن تھکانہ ۔ تاگ ۔ چھوڑ کر ۔ کاہے ۔ کیسے ۔ سچ پادیہہ ۔ حقیقت واصل حاصل ہوگا۔ ممتا۔ میری ملکیتی ہوس۔ موہ ۔ محبت۔ کامن ہتکاری ۔ عورت کا دلدادہ ۔ پریمی ۔ اودہوتی ۔ طارق۔ سنساری ۔ گھریلو زندگی والا خانہ دار (1) بیس رہو۔ پر سکون ۔ ذہن نیشن ۔ دبدھا ۔ دوچتی ۔ دوسروں سے امید۔ دکھ ۔ عذآب ۔ بھاگے ۔ مٹے ۔ لاج ۔ حیا ۔ شرم (1)ر ہاؤ۔ چیتیہہ آپ ۔ خوئش پڑتال ۔ اپنے آپ کی حقیقت کی پہچان ۔ نورے ۔د ور ہو۔ پر تاپ ۔ دوسروں کی تپش ۔ خواہشات کی آگ۔ من بھائے ۔ ولی پیار۔ سہج وچاری ۔ روحانی سکون کی سمجھ سوچ۔ خیال۔ بھیکھیا۔ خیرات۔ بھیک (2) بھسم۔ راکھ ۔ سوآہ۔ پاکھنڈ۔ دکھاوا۔ مائیا موہ ۔د نیاوی دولت کی محبت۔ سہے جسم ڈنڈ ۔ موت کے فرشتے کی سزا برداشت کرتا ہے ۔ پھوٹے کھاپر۔ شکستہ دل ۔ بھیکھ ۔ خیرات۔ من بھائے ۔ دل کو پیاری لگتی ہے ۔ بندھن باندھیا۔ غلامی میں گرفتار ۔ آوے جائے ۔ تناسخ میں پرا رہتا ہے (3) بند ۔ بیج ۔ تخم ۔ جتی ۔ شہوت پر ضبط رکھنے والا۔ مائی ۔ دنیاوی دوولت۔ ترے ۔ لوبھاویہہ۔ تینوںد نیاوی اوصاف کا لالچ کرتا ہے ۔نردیا ۔ بیرحم۔ جوت اجالا۔ روشنی روحانی ۔ بوڈت بودے سرب جنجالا۔ سارے ہر طرح کے جنجالوں میں ڈوب گیا (4) بھیکھ ۔ بھیس ۔ دکھاوا۔ کھنتھا ۔ گنتی ۔ گودڑی ۔ تھٹوآ۔ بناوٹ۔ نٹوآ۔ نٹ ۔ مداری ۔ انتر اگن ۔ دلمیں خواہشات کی آگ۔ چنتا ۔فکر تشویش ۔ جارے ۔ جلائے ۔ بن گرما۔ بغیر اعمال۔ اترس پار ۔ کا میابی حاصل ہو (5) خٹک ۔ کانچ ۔ مکت ۔ نجات۔ آزادی ۔ بیط ۔ ودیا ۔ علم ۔ وگیانی ۔ سمجھ ۔ جہوا۔ زبان۔ اندری ۔ شہوت۔ سادلوبھانا۔ لطف و مزے کا لالچ ۔ پسو۔ حیوان۔ مٹے نیسانا۔ نشان یا حکرتیں نہیں مٹتیں (6) تر دھ ۔ تین طریقے ۔ سبد وچارے ۔ جو سبق مرشد کو سمجھتا ہے ۔ چوکس سوگا۔ اس کی تشویش ختم ہوجاتی ہے ۔ اُجل۔ پاک ۔ ساچ ۔ سدیوی سچ ۔ سو سبد ہوئے ۔ وہی کلام وہی درس ہے ۔ جگت ۔ تدبیر ۔ طریقہ ۔ وچارے سوئے ۔ وہی سوچتا ہے (7) نؤ ندھ ۔ نو خزانے ۔ کرنے جوگ کرنے کی توفیق رکھنے والا۔ تھاپ اُتھاپے ۔ پیدا کرکے مٹانے والا۔ کرےس و ہوگ۔ جو کرتا ہے وہ ہوتا ہے ۔ جت ۔ شہوت پر ضبط۔ ست ۔سچا صدیوی ۔ سحت ۔ پاک دل ۔ تربھون۔ تینوں عالموں کا میت ۔ دوست۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے جوگی ذہن نشین رہ اس سے دوچتی غیر یقتینی مٹ جائیگی ۔ دوچتی اور غیر یقینی کا عذاب دور ہوجائیگا۔ اور گھر گھر مانگنے کی ذلت نہ اُٹھانی پڑیگی (1) رہاؤ۔ لوگوں کو پیدا کرتا ہے وہ اعظ دیتا ہے اور پیت کی پرورش کرکے پیٹ بڑھاتا ہے ۔ جب ذہن میں سکون نہ ہو تو حقیقت کیسے حاصل کریگا۔ جسے دولت کی میری تیری سے دلچسپی ہو عورت کا پریمی ہو وہ نہ طارق ہے نہ دنیا دار (1) لوگوں کو الہٰی گیت گا کر سناتا ہے مگر اپنے قلب و اعمال کی پہچان اور پڑتال نہیں کرتا۔ پرائی دنیاوی تپش اپنا اثر ڈال رہی ہے یہ کیسے دور ہوگی ۔ جو انسان دلی محبت سے کلام مرشد عمل پیرا ہوتا ہے ۔ وہ روحانی سکون کو سمجھ کر روحانی سکون کی بھیک کھاتا ہے (2) بدن پر راکھ ملتا ہے دکھاوا کرتا ہے اور دنیاوی دولت کی محبت میں سزا پاتا ہے ۔ جو شکستہ دل ہوجائے مراد مستقل مزاج نہ رہے اس کےد ل میں سچ و حقیقت الہٰی نام نہیں ٹھہر سکتا مراد نام کی سچ حق و حقیقت کی خیرات کی بھیک اس کے شکستہ دل میں ٹھہر نہیں سکتی ۔ جو صرف پریم پیار سے ملتی ہے ۔ در نہ ذہنی غلامی کی وجہ سے تناسخ میں پڑا رہتا ہے (3) شہوت پر ضبط نہیں مگر جتی کہلاتا ہے ۔ دولت اور سرمایہ مانگتا ہے اور تینوں زندگی کے اوصاف رجو ۔ ستو ۔ طمو ۔ ترقی ۔ طاقت اور لالچ کی گرفت میں ہے ۔ جس کے دل میں رحم نہ ہو سخت دل ہو اس کے ذہن میں الہٰی نور نہیں ہو سکتا ذہن نورانی نہیں ہو سکتا ۔ وہ دنیاوی مخمسے یا اس جنجال میں ڈوب جاتا ہے ۔ مراد زندگی بر باد کر لیتا ہے (4) گودڑی و گننی وغیرہ پہن کر دکھاوے کے لئے مذہبی پہراوا کر رہا ہے اور مداری کی طرف جو لوگوں سے پیسے کمانے کے لئے جھوٹے کھیل کرتا ہے ۔ مراد جو کچھ کرتا ہے حقیقت سے دور ہے جس کے دل میں خواہشات اور ہوس کی آگ جل رہی ہو غم کھا رہا ہو وہ بغیر نیک اعمال اور نیکی کے زندگی کامیاب نہیں بنا سکتا (5) م حض کانچ کی مندریں کانوں میں ڈالنے سے نجات حاصل نہیں ہو سکتی ۔ روحانی بیداری سمجھ تعلیم کے بغیر زہنی غلامی سے نجات حاصل نہیں ہو سکتی ۔ زبان اور شہوت کی لذتوں میں گرفتار رہے حقیتنا ً حیوان ہے اور یہ حیوانیت کی نشانی مٹ نہیں سکتی (6) جس طرح سے تینوں اوصاف کی گرفت میںع ام لوگ ہیں اسی طرح سے ہی جوگی ہے جو سبق یا کلام مرشد کو ذہن نشین کرتا ہے اس کی تشویش او ر فکرات مٹ جاتے ہیں ۔ پاکیزگی سچے صدیوی سچ و حقیقت سے حاصل ہوتی ہے ۔ جس کے دل و ذہن میں ایسا سبق و کلام ذہن نشین ہوتا ہے ۔ وہی حقیقی جوگی ہے وہی طرز زندگی سمجھتا ہے (7) اے خدا تو نو خزانوں کا مالک ہے اور کرنے کی حیثیت و توفیق کا مالک ہے تو پیدا کرکے مٹا دیتا ہے جو تو کرتا ہے وہی ہوتا ہے ۔ شہوت پر ضبط سچائی ۔ پرہیز گاری صدیویس چ اور پاک دل ہے جو اے نانک وہ تینوں عالموں کا دوست دلدادہ پیارا ہے ۔

رامکلیِمہلا੧॥
کھٹُمٹُدیہیِمنُبیَراگیِ॥
سُرتِسبدُدھُنِانّترِجاگیِ॥
ۄاجےَانہدُمیرامنُلیِنھا॥
گُربچنیِسچِنامِپتیِنھا॥੧॥
پ٘رانھیِرامبھگتِسُکھُپائیِئےَ॥
گُرمُکھِہرِہرِمیِٹھالاگےَہرِہرِنامِسمائیِئےَ॥੧॥رہاءُ॥
مائِیاموہُبِۄرجِسماۓ॥
ستِگُرُبھیٹےَمیلِمِلاۓ॥
نامُرتنُنِرمولکُہیِرا॥
تِتُراتامیرامنُدھیِرا॥੨॥
ہئُمےَممتاروگُنلاگےَ॥
رامبھگتِجمکابھءُبھاگےَ॥
جمُجنّدارُنلاگےَموہِ॥
نِرملنامُرِدےَہرِسوہِ॥੩॥
سبدُبیِچارِبھۓنِرنّکاریِ॥
گُرمتِجاگےدُرمتِپرہاریِ॥
اندِنُجاگِرہےلِۄلائیِ॥
جیِۄنمُکتِگتِانّترِپائیِ॥੪॥
الِپتگُپھامہِرہہِنِرارے॥
تسکرپنّچسبدِسنّگھارے॥
پرگھرجاءِنمنُڈولاۓ॥
سہجنِرنّترِرہءُسماۓ॥੫॥
گُرمُکھِجاگِرہےائُدھوُتا॥
سدبیَراگیِتتُپروتا॥
جگُسوُتامرِآۄےَجاءِ॥
بِنُگُرسبدنسوجھیِپاءِ॥੬॥
انہدسبدُۄجےَدِنُراتیِ॥
اۄِگتکیِگتِگُرمُکھِجاتیِ॥
تءُجانیِجاسبدِپچھانیِ॥
ایکورۄِرہِیانِربانیِ॥੭॥
سُنّنسمادھِسہجِمنُراتا॥
تجِہءُلوبھاایکوجاتا॥
گُرچیلےاپنامنُمانِیا॥
نانکدوُجامیٹِسمانِیا॥੮॥੩॥
لفظی معنی:
گھٹ ۔چھ ۔ مٹ ۔ مٹھ ۔ دیہی ۔ جسم۔ بیراگی ۔ طارق الدنیا ۔ سرت ۔ ہوش۔ سبد۔ کلام۔د ھن۔ لگن۔ انحد۔ لگاتار۔ روھانی سکون کا سنگیت جو بغیر کسی ساز کے بجتا ہے جو اندیش یکجہتی سے سنگیت ک شکل ہے ۔سچ نام ۔ پتینا ۔ سچے صدیوی نام سچ و حقیقت میں ایمان و یقین (1) پرانی ۔ اے انسان الہٰی عشق سےسکھ حاصل ہوتا ہے ۔گور مکھ ۔ مرشد کے وسیلے سے ۔ ہر ہر نام سمایئے ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت میں محو ومجذوب (1)ر ہاؤ۔ نرمولک ۔ اتنا قیمتی کہ قیمتی کا اندازہ نہیں ہو سکتا ۔ بورج ۔ روک کر ۔ ستگر بھیٹے ۔ سچا مرشد سے ملاپ ہو۔ تت راتا۔ اس کے تاثرات سے ۔ متاچر ۔ دھیرج دھیرا ۔ مستقل مزاجی (2) ہونمے ۔ خودی ۔ ممتا۔ ملکیتی لالچ ۔ روگ ۔ بیماری ۔ جسم۔ موت ۔ بھو ۔ خوف۔ بھاگے ۔ مٹتا ہے ۔ جندار۔ ظالم خوفناک ۔ نرمل۔ پاک ۔ ردے ۔ دلمیں (3) نرنکاری ۔ خدا کے پیارے ۔ عاشق۔ کٹھورتا۔ سخت دل ۔ گرمت۔ سبق مرشد۔ درمت پر ہاری ۔ بد عقلی مٹائی ۔ اندن ۔ ہر روز۔ جاگ ۔ بیداری ۔ جیون مکت ۔ دوران حیات نجات ۔ گت۔ حالت ۔ انتر پائی ۔ اپنے اندر ہی نصیب ہوئی (4) الپت ۔ کنچھا ۔ جسمانی غار جو بیلاگ ہے ۔ مراد ذہن نرارے ۔ نرالے ۔ انوکھے ۔ تسکر ۔ چور۔ سنگھ ارے ۔ مٹائے ۔ سہج نترنتر۔ لگاتار سکون میں ۔ رہو سمائے ۔ محو ومجذوب رہو (5) طارق الدنیا ہے ( وہی ہے ۔ جو مرشد کےو سیلے سے پیدا ہے ۔ تت ۔ اصل۔ حقیقت ۔ بنیاد۔ سوتا۔ لاپرواہ ۔ غفلت میں۔ سبد۔ کلام ۔ سوجہی ۔ سمجھ (6) انحد سبد۔ لگاتار آواز۔ اوگت ۔ اوجھل ۔ خدا۔ گورمکھ جاتی ۔ مرشد کے وسیلے سے سمجھ آتی ہے ۔ تو ۔ تب۔ جانی سمجھ آتی ہے ۔ سبد پچھانی ۔ کلام سے پہچان ہو جائے ۔ نربانی ۔ بلا خواہش۔ (7) سن سمادھ ۔ ذہن کی ایسی حالت جہاں خیالات کی آمدورفت ختم ہوجاتی ہے ۔ مکمل سکون ۔ راتا۔ محو ۔ لوبھا۔ لالچ۔ ایکو جاتا۔ واحد سمجھا۔ گر چیلے ۔ مرید و مرشد۔ دوجا میٹ۔ دوئی دور رکے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان ۔ الہٰی خدمت و عبادت سے ہی روحانی سکون حاصل ہوتا ہے ۔ مرشد کے وسیلے سے خدا سے پیار ہوجاتا ہے تب الہٰی نام سچ و حقیقت میں محو ومجذوب ہو جاتا ہے (1) رہاؤ۔ یہ چھ چکر والا جسم ہی ایک مٹھ کی مانند ہے ۔ اس میں رہ کر من طارق الدنیا ہو گیا اور سبق و کلام مرشد میرے ذہن میں بس گیا ۔ الہٰی نام سچ و حق و حقیقت کی میرے دل میں دلچپسی پیدا ہوگئی ہے ۔ اور ایمان و یقین ہو گیا ہے (1)د نیاوی دولت کی محبت ختم کرکے سچے مرشد کے ملاپ سے وہ الہٰی نام میں محو و مجذوب ہوجاتا ہے ۔ الہٰی نام سچ و حق و حقیقت ایک بیش قیمت جس کی قیمت کا اندازہ نہیں ہو سکتا اس میں میرا من محو ہوکر مستقل مزاجی پاتا ہے ۔ تسیکن محسوس کر تا ہے (2) اس سے خودی اور دنیاوی دولت کی محبت کی بیماری اپنا تاثر نہیں بناتی ۔ موت کا خوف مٹ جاتا ہے اور خوفناک موت اپنا تاثر نہیں ڈالتی اور پاک نام سچ و حقیقت سے شہرت حاصل ہوتی ہے (3) سبد کی وسچار سے انسان الہٰی پیروکار ایمان والا ہوجاتا ہے اس سے سبق مرشد دل میں بستا ہے کم عقلی اور برائیاں دور ہوجاتی ہیں اور ہر روز بیداری و ہوشیاری میں گذارتے ہیں انہیں اپنے اندر زندگی کی غلامی سے نجات حاسل ہوجاتی ہے (4) وہ جسمانی چھا مراد ذہنی طور پر دنیاوی دولت سے بیلاگ رہتے ہیںا ور دنیاوی دولت سے متاثر نہیں ہوتے اور پانچوں اخلاقی و روحانی چوروں کو کلام مرشد سے ختم کر دیتے ہیں اورا پنے دل کو دوسروں کی طرف لالچی نگاہوں سےد یکھنے نہیں دیتے ۔ لگاتار روحانی سکون میں محو ومجذوب رہتا ہے (5) مرید مرشد ہمیشہ بیدار و ہوشیار اور طارق الدنیا ہے ۔ جو ہمیشہ عالم کی بنیاد خداوند کریم کو دلمیں بسائے رکھتا ہے ۔ عالم دنیاوی دولت کی محبت میں غفلت کی نیند سویا رہتا ہے ۔ بغیر کلام مرشد سمجھ نہیں آتی (6) کلام مرشد اس پر روز و شب اپنا تاثر قائم رکھتا ہے ۔ اسے یہ سمجھ آجاتی ہے کہ نظروں سے اوجھل ہستی کی پہچان مرشد کے ذریعے ہوتی ہے اس کے کلام سے (7) ذہن و من اس یکسوئی میں محو ومجذو ب رہتا ہے جہاں دنیاوی خیالات کی روہیں سکان ہوجاتی ہیں۔ لالچ اور خودی چھوڑ کر واحد خدا سے ہی وابسطہ ہوجاتا ہے ۔ اے نانک۔ وہ دوئی مٹا کر خدا میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੧॥
ساہاگنھہِنکرہِبیِچارُ॥
ساہےاوُپرِایکنّکارُ॥
جِسُگُرُمِلےَسوئیِبِدھِجانھےَ॥
گُرمتِہوءِتہُکمُپچھانھےَ॥੧॥
جھوُٹھُنبولِپاڈےسچُکہیِئےَ॥
ہئُمےَجاءِسبدِگھرُلہیِئےَ॥੧॥رہاءُ॥
گنھِگنھِجوتکُکاںڈیِکیِنیِ॥
پڑےَسُنھاۄےَتتُنچیِنیِ॥
سبھسےَاوُپرِگُرسبدُبیِچارُ॥
ہورکتھنیِبدءُنسگلیِچھارُ॥੨॥
ناۄہِدھوۄہِپوُجہِسیَلا॥
بِنُہرِراتےمیَلومیَلا॥
گربُنِۄارِمِلےَپ٘ربھُسارتھِ॥
مُکتِپ٘رانجپِہرِکِرتارتھِ॥੩॥
ۄاچےَۄادُنبیدُبیِچارےَ॥
آپِڈُبےَکِءُپِتراتارےَ॥
گھٹِگھٹِب٘رہمُچیِنےَجنُکوءِ॥
ستِگُرُمِلےَتسوجھیِہوءِ॥੪॥
گنھتگنھیِئےَسہسادُکھُجیِئےَ॥
گُرکیِسرنھِپۄےَسُکھُتھیِئےَ॥
کرِاپرادھسرنھِہمآئِیا॥
گُرہرِبھیٹےپُربِکمائِیا॥੫॥
گُرسرنھِنآئیِئےَب٘رہمُنپائیِئےَ॥
بھرمِبھُلائیِئےَجنمِمرِآئیِئےَ॥
جمدرِبادھءُمرےَبِکارُ॥
نارِدےَنامُنسبدُاچارُ॥੬॥
اِکِپادھےپنّڈِتمِسرکہاۄہِ॥
دُبِدھاراتےمہلُنپاۄہِ॥
جِسُگُرپرسادیِنامُادھارُ॥
کوٹِمدھےکوجنُآپارُ॥੭॥
ایکُبُرابھلاسچُایکےَ॥
بوُجھُگِیانیِستگُرکیِٹیکےَ॥
گُرمُکھِۄِرلیِایکوجانھِیا॥
آۄنھُجانھامیٹِسمانھِیا॥੮॥
جِنکےَہِردےَایکنّکارُ॥
سربگُنھیِساچابیِچارُ॥
گُرکےَبھانھےَکرمکماۄےَ॥
نانکساچےساچِسماۄےَ॥੯॥੪॥
لفظی معنی:
ساہا۔ مہورت ۔ وقت کے نیک و بد کی تمیز ۔ گنیہہ۔ گنے ۔ سمجھے ۔ وچار۔ سوچ ۔ سجھ ۔ا یکنکار۔ واحد خدا۔ بدھ ۔ طریقہ ۔ جگت ۔ حکم پچھانے ۔ رضا سمجھے (1) سبد گھر لہیئے ۔ کلام سے حقیقی مقام (1) رہاؤ۔ گن گن ۔ گن گن کے ۔ کانڈی ۔ جنم پتری ۔ تت۔ اصلیت ۔ حقیقت۔ کتھنی بدؤ۔ اور باتیں نہیں کہتا۔ چھار (2) راکھ ۔ سوآہ ۔ سیلا۔ پتھر ۔ پوجیہہ۔ پرستش کرتا ہے ۔ ہر راتے ۔ الہٰی محبت ۔ میلے میلا۔ ناپاک۔ گربھ ۔ غرور ۔ سارھ ۔ رتھوان ۔ سوآرتھ ۔ مالیاتی ضرورتوں کے ساتھ ۔ کرتارتھ ۔ کامیاب۔ مکت پران۔ زندگی نجات پاتی ہے ۔ واد ۔ جھگڑا ۔ بحث مباحثہ ۔ چینے ۔سمجھے (4) گنت گنیئے ۔ حساب یا شمار کرنے سے ۔ سہسا ۔ف کر ۔ تشویش۔ تھیئے ۔ ہوتا ہے ۔ اپرادھ ۔ گناہ ۔ پرب کمائیا۔ پہلے کئے اعمال (5) برہم۔ خدا۔ بھرم بھلاییئے ۔ وہم وگمان میں گمراہ ۔ بکار بلاوجہ ۔ بیفائدہ ۔ ردے نام۔ دلمیں حقیقت و اصلیت ۔ سبداچار۔ نہ اخلاق نہ روحانی چال چلن (6) محل۔ ٹھکانہ ۔ ادھار۔ آسرا۔ کوٹ مدھے ۔ کروڑوں میں سے (7) سچ ۔ با لیقین ۔ یقین سے ۔ ٹیکے ۔ اسرے ۔ گورمکھ ۔ مرشد کے زریعے ۔ آون جانا۔ تناسخ (8) ایکنکار ۔ واحد خدا۔ سب گنی ۔ سارے اوصاف والا۔ ساچا وچار۔ صدیوی سچے خیالات۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے پنڈت جھوٹھ نہ بول سچ بولنا چاہیےے ۔ جب کلام مرشد پر عمل کرکے خودی مٹ جاتی ہے ۔ اور وہ مقام حاصل ہوجاتا ہے (1) رہاؤ۔ اے پنڈت موقعے محل کا شمار کرتا ہے مگر اس سے بلند ہستی خدا واحد کی ہے ۔ جسے مرشد مل جاتا ہے وہی اس کے طور طریقے جانتا ہے ۔ جسکا ملاپ مرشد سے پاکر سبق مرشد سے رضائے الہٰی کی پہچان پالیتا ہے (1) جوتش کا حساب نکال کر جنم پتری بناتا ہے ( پڑتھا ہے اور سناتا ہے ۔ مگر حقیقت کی پہچان نہیں کرتا۔ سب بلند اور اعلے خیال یہ ہے کہ کلام مرشد دل میں بسائے ۔ دوسری کسی بات کا خیال نہ کرؤ ساری باتیں بیکار اور سوآہ راکھ ہیں (2) اشنان و غسل کرتا ہے صفائی کرتا ہے پتھر سے بنتی ہوئی تصویروں یا مورتویں کی پرستش کرتا ہے ۔ مگر خدا کی عبادت وریاضت میں محویت و مجذوبیت کے ناپاک ہے ناپاک ۔ غرور مٹانے سے ہی ضرورتیں مہیا کرنے والے خدا کا ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔ کامیابی عنایت کرنے والے خدا کی یاد وریاض سے ہی کامیابی حاصل ہوتی ہے (3) مباحثے اور بحث کرتا ہے ویدوں کو نہیں سمجھتا جب خود ہی ڈوب رہا ہو غلط خیالات اور بدکاریوں کی لہروں میں اپنے بزرگوں کو کیسے کامیاب بنائے گا۔ ہر دلمیں بستے خدا کی پہچان اسے ہوتی ہے اور کرتا ہے اور سمجھ اُصے آتی ہے (جو) جسکا ملاپ سچے مرشد سے ہوجاتا ہے (4) جیسے جیسے نیک و بد مواقعات کا حساب کرؤ گے ویسے ویسے زندگی تشویش فکر و عذاب میں مبتلا رہیگی ۔ پناہ مرشد سے آرام و آسائش حاصل ہوتی ہے ۔ گناہگار ہوکر گناہ کرکے جب الہٰی پناہ لیتے ہیں ۔ تو وہ پہلے کئے ہوئے اعمال کی مطابق مرشد سے ملا دیتا ہے (5) مرشد کی پناہ کے بغیر ملاپ نہیں ہوتا۔ وہم وگمان کی گمراہی میں تناسخ میں پڑا رہتا ہے ۔ کوتوال الہٰی کے در پر الہٰی کوتوالی میں گرفتار بلاوجہ روحانی واکلاقی موت مرتا ہے نہ دلمیں الہٰی نام سچ و حقیقت ہے ۔ نہ کلام مرشد نہ اخلاق و چال چلن (6) ایک اپنے آپ کو پادھے پنڈت اور مصر کہلاتے ہیں۔ مگر دوچتی میں محصور اصلیت اور حقیقت نہیں پاتے ۔ جنہوں نے مرشد کی رحمت سےا لہٰی نام سچ و حقیقت کا آسرا لیا کروڑوں میں سے کوئی انوکھا نرالا انسان ہے (7) خواہ نیک ہے یا بد سبھ میں بستا ہے ۔ واحد خدا ۔ اے عالم پنڈت سچے مرشد کا آسراے اور یہ سمجھ لے کہ انہیں نے ہرج گہ خدا کو موجود سمجھا ہے انہوں نے تناسخ مٹا کے خدا میں محو ومجذوب رہتے ہیں (8) جن کے دل میں بستا ہے واحد خدا سارے اوصاف کا مالک صدیوی سچا سچے حقیقی خیالات والا وہ ہمیشہ الہٰی رضا میں راضی رہ کر اعمال کرتا ہے اور اے نانک وہ صدیوی سچے سچ و حقیقت میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੧॥
ہٹھُنِگ٘رہُکرِکائِیاچھیِجےَ॥
ۄرتُتپنُکرِمنُنہیِبھیِجےَ॥
رامنامسرِاۄرُنپوُجےَ॥੧॥
گُرُسیۄِمناہرِجنسنّگُکیِجےَ॥
جمُجنّدارُجوہِنہیِساکےَسرپنِڈسِنسکےَہرِکارسُپیِجےَ॥੧॥رہاءُ॥
ۄادُپڑےَراگیِجگُبھیِجےَ॥
ت٘رےَگُنھبِکھِیاجنمِمریِجےَ॥
رامنامبِنُدوُکھُسہیِجےَ॥੨॥
چاڑسِپۄنُسِنّگھاسنُبھیِجےَ॥
نِئُلیِکرمکھٹُکرمکریِجےَ॥
رامنامبِنُبِرتھاساسُلیِجےَ॥੩॥
انّترِپنّچاگنِکِءُدھیِرجُدھیِجےَ॥
انّترِچورُکِءُسادُلہیِجےَ॥
گُرمُکھِہوءِکائِیاگڑُلیِجےَ॥੪॥
انّترِمیَلُتیِرتھبھرمیِجےَ॥
منُنہیِسوُچاکِیاسوچکریِجےَ॥
کِرتُپئِیادوسُکاکءُدیِجےَ॥੫॥
انّنُنکھاہِدیہیِدُکھُدیِجےَ॥
بِنُگُرگِیانت٘رِپتِنہیِتھیِجےَ॥
منمُکھِجنمےَجنمِمریِجےَ॥੬॥
ستِگُرپوُچھِسنّگتِجنکیِجےَ॥
منُہرِراچےَنہیِجنمِمریِجےَ॥
رامنامبِنُکِیاکرمُکیِجےَ॥੭॥
اوُݩدردوُنّدرپاسِدھریِجےَ॥
دھُرکیِسیۄارامُرۄیِجےَ॥
نانکنامُمِلےَکِرپاپ٘ربھکیِجےَ॥੮॥੫॥
لفظی معنی:
ہٹھ ۔ ضد۔ زور ۔ زبردستی ۔ نگریہہ ۔ خواہشات یا خیالات پر قابو ۔ کائیا ۔ سر یر ۔ سجم۔ چھیجے ۔ ٹوٹتا ہے ۔ درت ۔ پرہیز گاری ۔ تین ۔ تپسیا ۔ بھیجے ۔ متاثر نہیں ہوتا۔ رام نام سر۔ الہٰی نام کے برابر۔ اور ۔ دوسرا۔ پوجے ۔ پجے ۔ پہنچتا ہے (1) گرسیو ۔ خدمت مرشد سے ۔ ہرجن ۔ خادم خدا۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ جسم جندار ۔ جاہل جسم۔ جوہ ۔ تاک ۔ زیر نظر۔ سرپن ۔ دنیاوی دولت کو سانپنی سے تشبیح کیا ہے (1) رہاؤ۔ واد پڑے ۔ مذہبی بحث مباحثہ ۔ راگی ۔ گانے کے ذریعے ۔ جگ بھیجے ۔ عالم خوش رہتا ہے ۔ نریگن وکھیا۔ تینوں اوصاف والی دولت ۔د کھ سہیجے ۔ عذآب پاتا ہے ۔ (2) پون۔ سانس ۔ سنگھاسن بھیجے ۔ مراد ذہن متاثر ہوتا ہے ۔ تیولی کرم ۔ انتڑیوں کو چکر دلانا۔ کھٹ کرم ۔ دہوتی ۔ نیتری ۔ نیولی ۔ وستی ۔ تراٹک ۔ کپال بھاتی ۔د ہوتی ۔ گپڑے کا چیتھڑا۔ منہ کے ذریعے نگل کر معدے میں لیجا کر گدا کے ذریعے باہر نککالتا ۔ نیتری ۔ سوت کا دھاگا ناک میں ڈال کر منہ کے راستے باہر نکالنا۔ وستی ۔ بانس۔ کی پوری گدا میں رکھ کر سانس کے زور سے اس بانس کی پوری کے ذریعے پانی چڑھا کر انتڑیاں صافر کرنا۔ تراٹک ۔ آنکھوں کی نگاہ کسی چیز پر ٹکانی ۔ کپال ۔ بھائی ۔ لوہار کی دہولکنی ۔کیطرح سانس جلدی جلدی اندر کھینچنا اور نکالنا۔ برتھا۔ بیفائدہ (3) انتر پنچ اگن ۔ دلمیں پانچ احساسات بد۔ دھیرج دھیجے ۔ کیسے تکسین ملے ۔ سادلیجے ۔ لطف حاصل ہو۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ کائیا گڑ لیجے ۔ جسمانی قعلے قابو کرئے (4) انتر میل۔ قلب یا ہرداہو ۔ ناپاک ۔ تیرتھ بھرمیجے ۔ زیارت گاہوں کی زیارت کرئے ۔ بھٹکے ۔ سوچا۔ سچا ۔ پاک ۔ کرت پییا ۔ کئے ہوئے اعمال کا نتیجہ ۔ دوس الزام (5) ترپت نہیں تھیجے ۔ تسلی نہیں ہوتی ۔ منمکھ ۔ مرید من (6) سنگت جن ۔ خدمتگار خدا کا ساتھ و صحبت ۔ ہر راچے ۔ الہٰی محبت۔ کدا سے پیار ۔ کرم ۔ کام ۔ اعمال (7) اوندر ۔ چوہا ۔ دوندر۔ شور شرابا۔ پاس دھریجے ۔ علیدہ کرؤ۔ دھرکی سیوا۔ الہٰی خدمت۔ رام رویجے ۔خدا کو یاد کرؤ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل خدمت مرشد کر اور خادمان خدا کا ساتھ و صحبت کر ۔ تاکہ خوفناک فرشتہ موت تجھ پر اثر انداز نہ ہو اور دنیاوی دولت کا سانپ کاٹ نہ سکے الہٰی مزہ چکھ لطف لے (1) رہاؤ۔ پرہیز گاری ۔ تپسیا ۔ ۔یکسوئی کے لئے ۔ ضد۔ زور زبردستی سے جسمانی کمزوری پیدا ہوتی ہے ۔ ذہن و قلب اثر پذیر نہیں ہوتے ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت اپنانے کے برابر دوسرا برابری نہیں کرتا (1) انسان اور دنیا کے لوگ بحث مباحثے کرتے ہیں۔ اور مباحثات پڑھتے ہیں اور کھیل تماشون میں خوش رہتے ہیں اور تینوں اوصاف ترقی طاقت اور لالچ کی محبت میں گرفتار تناسخ میں پڑے رہتے ہیں اور نام سچ حق و حقیقت کے بغیر عذاب پاتا ہے انسان (2) جوگی یا ابھیاسی اپنا سانس طاقت سے ذہن و ماغ یا جسم کے دسویں ور پہنچاتا ہے ۔ جس سے ذہن یاد ماغ متاچر ہوتا ہے ۔ نیولی اور جوگ کے چھ کام کرتا ہے ۔ مگر تاہم الہٰی نام سچ حق و حقیقت اپنائے بغیر سبھ بیکار اور بیفائدہ ہیں اور ہر سانس بیکار جا رہا ہے (3) دلمیں پانچوں بدعتوں کی آگ بھڑک رہی ہے ۔ شہوت بھتہ ۔ لالچ دنیاوی عشق ۔ غرور وتکر ۔ زور پار رہے ہیں تو تسلی و تسکین کیسے حاصل ہو ۔ جب تک دلمیں مندرجہ بالا چور اسے اپناجائے مسکن بنائے ہوئے ہیں تو روحانی قلبی ذہنی سکوں میسر نہیں ہو سکتا ۔ مرید مرشد ہوکر اس جسمانی قلعے کو فتھ کرے قابض ہوجائے (4) اگر دل ناپاک ہو زیارت گاہوں پر بھٹکتا رہے مگر جب قلب ۔ ذہن ہی پاک نہیں تو پاکیزگی بیرونی بے معنی ہے ۔ پہلے کئے ہوئے اعمال کی لائن عادت کا نتیجہ ہے کسی پرا اسکا الزام نہیں لگائیا جا سکتا نہ مجرم ٹھہرائیا جا سکتا ہے (5) جو اناج نہیں کھاتے اپنے آپ اور جسم کو ضعف پہنچاتے ہیں۔ بغیر مرشد اور علم کے تسلی و تسکین نہیں پاتے ۔ تناسخ میں پڑے رہتے ہیں (6) سچے مرشد کے مشورے سے خدمتگار ان الہٰی کا ساتھ اور صحبت کرنی چاہیے ۔ اس سے دل عشق الہٰی میں محو رہتا ہے ہچکچاہٹ۔ نیم دروں نیم برؤں ۔ پس و پیش و غیر یقینی نہیں رہتی انسان مستقل مزاج ہوجاتا ہے ۔ جبکہ مرید من ایسے غیر یقینی حالات میں پڑا رہتاہے (7) اندرونی دلی گھسر مسر۔ دلی جذبے ۔ چوہے کی طرف بل کے اندر شور شرابہ ظاہر کر دینا چاہیے ۔ تاکہ شک و شبہات باقی نہ رہے ۔ خدا کی طرف سے عائد خدمت کرؤ اور خدا میں محو رہو اے نانک۔ اگر خدا کرم و عنایت فرمائے تو الہٰی سچ حق و حقیقت حاصل ہو ۔

رامکلیِمہلا੧॥
انّترِاُتبھُجُاۄرُنکوئیِ॥
جوکہیِئےَسوپ٘ربھتےہوئیِ॥
جُگہجُگنّترِساہِبُسچُسوئیِ॥
اُتپتِپرلءُاۄرُنکوئیِ॥੧॥
ایَسامیراٹھاکُرُگہِرگنّبھیِرُ॥
جِنِجپِیاتِنہیِسُکھُپائِیاہرِکےَنامِنلگےَجمتیِرُ॥੧॥رہاءُ॥
نامُرتنُہیِرانِرمولُ॥
ساچاساہِبُامرُاتولُ॥
جِہۄاسوُچیِساچابولُ॥
گھرِدرِساچاناہیِرولُ॥੨॥
اِکِبنمہِبیَسہِڈوُگرِاستھانُ॥
نامُبِسارِپچہِابھِمانُ॥
نامبِناکِیاگِیاندھِیانُ॥
گُرمُکھِپاۄہِدرگہِمانُ॥੩॥
ہٹھُاہنّکارُکرےَنہیِپاۄےَ॥
پاٹھپڑےَلےلوکسُنھاۄےَ॥
تیِرتھِبھرمسِبِیادھِنجاۄےَ॥
نامبِناکیَسےسُکھُپاۄےَ॥੪॥
جتنکرےَبِنّدُکِۄےَنرہائیِ॥
منوُیاڈولےَنرکےپائیِ॥
جمپُرِبادھولہےَسجائیِ॥
بِنُناۄےَجیِءُجلِبلِجائیِ॥੫॥
سِدھسادھِککیتےمُنِدیۄا॥
ہٹھِنِگ٘رہِنت٘رِپتاۄہِبھیۄا॥
سبدُۄیِچارِگہہِگُرسیۄا॥
منِتنِنِرملابھِمانابھیۄا॥੬॥
کرمِمِلےَپاۄےَسچُناءُ॥
تُمسرنھاگتِرہءُسُبھاءُ॥
تُمتےاُپجِئوبھگتیِبھاءُ॥
جپُجاپءُگُرمُکھِہرِناءُ॥੭॥
ہئُمےَگربُجاءِمنبھیِنےَ॥
جھوُٹھِنپاۄسِپاکھنّڈِکیِنےَ॥
بِنُگُرسبدنہیِگھرُبارُ॥
نانکگُرمُکھِتتُبیِچارُ॥੮॥੬॥
لفظی معنی:
انتر ۔ فرق ۔ انبھج۔ پیدائش ۔ اور ۔ دوسرا۔ جوکیئے ۔ جس کی بابت کہیں۔ سو پربھ تے ہوئی ۔ خدا ہی پیدا کرنے ولا ہے ۔ جگیہہ جگنتر ۔ ہر جگ ہر زمانے میں۔ صاحب۔ مالک ۔ سچ سوئی ۔ صدیوی سچ وہی ہے ۔ اتپت ۔ پیدا کرنا ۔ پرلو۔ مٹانے والا۔ اور نہ کوئی ۔ نہیں کوئی دوسرا (1) گہر گھنبیر ۔ دور اندیش ۔ گہری سوچ والا مستقل مزاج ۔ ہر کے نام ۔ الہٰی نام سچ و حق و حقیقت۔ جسم تیر۔ موت کے فرشتے کی سزا (1) رہاؤ۔ ساچا۔ صدیوی اور سچا۔ امر۔ جاویداں۔ اتول ۔ جو تو لیا نہ جا سکے ۔ سوچی ۔ پاک ۔ نرمول۔ جس کی قیمت کا اندازہ نہ ہو سکے ۔ سوچی ۔ پاک ۔ نرمول۔ جس کی قیمت کا اندازہ نہ ہو سکے ۔ رول ۔ بھول (2) بن ۔ جنگل۔ بیسیہہ ۔ بسے ۔ ہیں۔ ڈوگر استھان ۔ پہاڑوں میں۔ پچیہہ۔ ابھیمان ۔ غرور و تکبر میں جلتے ہیں۔ گیان ۔ علم ۔ دھیان۔ توجہ ۔ درگیہہ۔ بارگاہ الہٰی۔ مان۔ عزت۔ وقار۔ اداب۔ ہٹھ اہنکار۔ صدو غرور ۔ بھر مس۔ بھٹکے یا پھر تار ہے ۔ بیادھ ۔ جسمانی تکلیف (4) بند ۔ تخم۔ بیرج ۔ ڈولے ۔ ڈگگاتا ہے ۔ نر کے ۔ دوزک۔ لہے سزائی ۔ سزا پاتا ہے ۔ جل بل ۔ تشویش و غرور و برائیوں میں ذہنی طور پر جلتا ہے (5) سدھ ۔ خدا رسیدہ جنہوں نے اخلاقی و روحانی زندگی گذارنے کا طریقہ پالیا ہے ۔ سادکھ ۔ جو اسے پانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ہٹھ ۔ ضد۔ زور زبردستی ۔ نگریہہ۔ جسمانی اعضا پر قابو پاکر ۔ ترپتا ویہہ ۔ دل کی تسلی و تسکین ۔ گہے گر سیو ۔ خدمت مرشد کرے ۔ نرمل۔ پاک ۔ ابھیمان ابھید۔ غرور چلا جاتا ہے (6) کرم۔ بخشش۔ سچ ۔ صدیوی سچ ۔ سوبھاؤ۔ وہ پیارا۔ اپجیو۔ پیدا ہوتا ہے ۔ بھگتی بھاؤ۔ عبادتت وریاضت کا پریم پیار ۔ گورمکھ ہر ناؤ ۔ مرشد کے ذریعے الہٰی نام (7) ہوئے گربھ ۔ خودی و غرور۔ من بھینے ۔ دل پسیج جاتا ہے ۔ متاثر ہوتا ہے ۔ جھوٹھ ۔ پاکھنڈ نہ پاوس۔ جھوٹ اور دکھاوے سے لا حاصل ہے ۔ بن گر سبد۔ بغیر سبق یا کلام مرشد۔ گھر بار ۔ بارگاہ الہٰی۔ گورمکھ تت وچار۔ مرید مرشد ہوکر حقیقت و اصلیت کو سمجھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا آقا ایسا دور اندایش مستقل مزاج گہری سوچ سمجھ والا ہے جو اسکی یادوریاض کرتا ہے وہ ذہنی و روحانی سکون پاتا ہے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت پانے سے موت کا خوف مٹ جاتا ہے ۔ رہاؤ۔ الہٰی عالمی پیدائش میں کوئی تفریق نہیں ہوتی جس چیز کا بھی نام لو خدا نے پیدا کی ہے آغاز عالم سے وہی مالک ہے دنیا کو پیدا کرنے والی اور مٹانے والی وہی واحد ہستی ہے (1) الہٰی نام ایک بیش قیمت ہیرا جس کے مول کا تعین نہیں ہو سکتا ۔ وہ سچا مالک صدیوی جاویداں ہے اس کی عظمت کا اندازہ یا شمار نہیں ہو سکتا ہے ۔ جو زبان اس کی حمدوچناہ کرتی ہے وہ پاک ہے اور وہ جو کہتی اسکا کہنا سچا ہے وہ دل وہ گھر ساچا یا سچا ہے اس کے متعلق کوئی گمراہی نہیں (2) بیشمار انسان جنگلوں میں راہئش اختیار کر لیتے ہیں اور پہاڑوں کی غاروں میں راہئش اختیار کر لیتے ہیں مگر سچ و حقیقت کے بغیر کوئی علم و دانش و یکسوئی یا سمادھی بیکار ہے ۔ مرید مرشد بارگاہ الہٰی میں اداب و وقار پاتا ہے (3) دلی ضد اور تکبر و غرور سے الہٰی ملاپ حاصل نہیں ہوتا۔ جو مذہبی کتابیں پڑھ کر لوگوں کو سناتا ہے ۔ز یارت گاہوں کی زیارت کرتا ہے ۔ اس کی ذہنی و اخلاقی بیماری ختم نہیں ہوتی ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کے بغیر ذہنی و روحانی سکون آسائش حاصل نہ ہوگی ۔ خواہ کتنی کوشش کرئے شہوت کی خواہش مٹ نہیں سکتی ۔ دل ڈگمگاتا ہے اور دوزخ پاتا ہے ۔ شہوت پسندی کی وجہ سے جیلوں و قیدوبند کی سزائیں پاتا ہے ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت اپنائےبغیر زندگی بدکاریوں اور برائیوں جلتی بجھتی رہتی ہے (5) بیشمار جنہوں نے طرز زندگی کی راہ راست کو پالیا ہے اور جو پانے کے لئے کوشاں ہیں اور کتنے ہی والی اللہ اور پیرا اس طرح دلی ضد اور ہٹھ دھرمی سے اپنی اندرونی احساس بد کو مٹا نہیں سکتے ۔ روحانی جدائی دور نہیں ہو سکتی ۔ جو سبق و کلام مرشد کو سمجھ پاتے ہیں اپنے ذہن نشین کرتے ہیں ان کے دلمیں پاکیزگی بس جاتی ہے ذہن نشین ہو جاتی ہے ان کی دل وجان ذہن و قلب پاک ہوجاتا ہے اور غرور و تکبر مٹ جاتا ہے (6) جس پر الہٰی کرم و عنایت و بخشش خدا ہوتی ہے ۔ اسے ہی الہٰی نام سچ و حقیقت حاصل ہوتی ہے اے خدا جو تیری پناہ میں آتا ہے اسے الہٰی پیار ہوتا ہے اور تیرے ( سے ) رحمت صدقہ ہی تیری بھگتی تیرا پیار بنتا ہے ۔ مرید مرشد ہوکر ہی الہٰی نام سچ و حقیقت کی یادوریاض کی جاسکتی یا اپنائی جا سکتی ہے (7) اگر دل سے غرور تکبر مٹے تب ہی دل الہٰی نام سچ حقیقت کا لطف اُٹھا سکتا ہے ۔ جھوٹ یا دکھاوے سے یہ نعمت حاصل نہیں ہو سکتی نہ ہی سبق و کلام مرشد کے بغیر عدالت عالیہ الہٰی کا درمستک تک رسائی حاصل ہو سکتی ہے ۔ اے نانک مرید مرشد ہوکر سچ و حقیقت و اصلیت کو سمجھ ۔

رامکلیِمہلا੧॥
جِءُآئِیاتِءُجاۄہِبئُرےجِءُجنمےتِءُمرنھُبھئِیا॥
جِءُرسبھوگکیِۓتیتادُکھُلاگےَنامُۄِسارِبھۄجلِپئِیا॥੧॥
تنُدھنُدیکھتگربِگئِیا॥
کنِککامنیِسِءُہیتُۄدھائِہِکیِنامُۄِسارہِبھرمِگئِیا॥੧॥رہاءُ॥
جتُستُسنّجمُسیِلُنراکھِیاپ٘ریتپِنّجرمہِکاسٹُبھئِیا॥
پُنّنُدانُاِسنانُ’ن’سنّجمُسادھسنّگتِبِنُبادِجئِیا॥੨॥
لالچِلاگےَنامُبِسارِئوآۄتجاۄتجنمُگئِیا॥
جاجمُدھاءِکیسگہِمارےَسُرتِنہیِمُکھِکالگئِیا॥੩॥
اہِنِسِنِنّداتاتِپرائیِہِردےَنامُ’ن’سربدئِیا॥
بِنُگُرسبدنگتِپتِپاۄہِرامنامبِنُنرکِگئِیا॥੪॥
کھِنمہِۄیسکرہِنٹوُیاجِءُموہپاپمہِگلتُگئِیا॥
اِتاُتمائِیادیکھِپساریِموہمائِیاکےَمگنُبھئِیا॥੫॥
کرہِبِکارۄِتھارگھنیرےسُرتِسبدبِنُبھرمِپئِیا॥
ہئُمےَروگُمہادُکھُلاگاگُرمتِلیۄہُروگُگئِیا॥੬॥
سُکھسنّپتِکءُآۄتدیکھےَساکتمنِابھِمانُبھئِیا॥
جِسکااِہُتنُدھنُسوپھِرِلیۄےَانّترِسہسادوُکھُپئِیا॥੭॥
انّتِکالِکِچھُساتھِنچالےَجودیِسےَسبھُتِسہِمئِیا॥
آدِپُرکھُاپرنّپرُسوپ٘ربھُہرِنامُرِدےَلےَپارِپئِیا॥੮॥
موُۓکءُروۄہِکِسہِسُنھاۄہِبھےَساگراسرالِپئِیا॥
دیکھِکُٹنّبُمائِیاگ٘رِہمنّدرُساکتُجنّجالِپرالِپئِیا॥੯॥
جاآۓتاتِنہِپٹھاۓچالےتِنےَبُلاءِلئِیا॥
جوکِچھُکرنھاسوکرِرہِیابکھسنھہارےَبکھسِلئِیا॥੧੦॥
جِنِایہُچاکھِیارامرسائِنھُتِنکیِسنّگتِکھوجُبھئِیا॥
رِدھِسِدھِبُدھِگِیانُگُروُتےپائِیامُکتِپدارتھُسرنھِپئِیا॥੧੧॥
دُکھُسُکھُگُرمُکھِسمکرِجانھاہرکھسوگتےبِرکتُبھئِیا॥
آپُمارِگُرمُکھِہرِپاۓنانکسہجِسماءِلئِیا॥੧੨॥੭॥
لفظی معنی:
پورے ۔ جھلے ۔ دیوانے ۔ اس بھوگ ۔ لطف نسا۔ مزے کرنے ۔ تیتا ۔ اتنا ۔ دکھ ۔ عذاب ۔ نام وسار ۔ سچ حق و حقیقت بھلا کر ۔ بھوجل۔ خوفناک سمندر (1) گربھ ۔ غرور ۔ تکبر ۔ کنک ۔ سونا۔ کامنی ۔ عورت ۔ ہیت ۔ محبت ۔ پیار۔ بھرم۔ بھٹکن ۔ تشویش (1) جت ۔ شہوت پر قابو ۔ ست ۔ بلند اخلاق۔ سنجم ۔ پرہیز گاری ۔ سیل ۔ شرافت ۔ پریت پنجر ۔ د روحوں کی طرح کی بدکاریوں میں۔ کاسٹ ۔ لکڑی ۔ پن ۔ ثواب۔ دان۔ خیرات۔ سنجم۔ پرہیز گاری ۔ ضبط۔ سادھ سنگت ۔ پار ساوں ۔ نیکوں ۔ پاکدامنوں کی صحبت و قربت ۔ باد ۔ جھگڑا (2) آوت جاوت جنم گیا۔ تناسخ۔ آواگون میں زندگی گذر گئی ۔ دھائے ۔ دوڑ کر ۔ کسی گہہ ۔ بال پکڑ کر ۔ سرت ۔ ہوش۔ مکھ ۔ کال ۔ موت کے منہ (3) اہنس ۔ رات دن ۔ روز و شب ۔ نندا ۔ بدگوئی ۔ برائی کونی ۔ تات ۔ پرائی ۔ حسد۔ کینہ ۔ بغض ۔ غیروں سے ۔ ہروے نام۔ دلمیں سچائی حق و حقیقت۔ ۔ سر ب دیا۔ سب سے مہربانہ سلوک ۔ نرک ۔ دوزخ (4) نٹوآ۔ مداری ۔ گلت گیا۔ غرقبا ہوا۔ ات اُت ۔ یہاں وہاں مراد ہر دو عالموں میں (5) مگن ۔ محو ۔ مست ۔ موہ مائیا۔ دنیاوی دولت کی محبت (5) بکار ۔ بیفائدہ ۔ دھار۔ پھیلاؤ۔ گھنیرے ۔ بہت زیادہ ۔ بھرم ۔ بھٹکن ۔س رت سبد۔ سبق و ہوش و کلام و دانشمندی ۔ بھرم۔ گمراہی ۔ ہومے ۔ خودی ۔ گرمت ۔ سبق وواعظ مرشد۔ روگ ۔ بیماری (6) سنپت ۔ دولت ۔ سرمایہ ۔ ساکت۔ مادہ پرست ۔ سرمایہ دار۔ ابھیمان ۔ مغرور ۔ انتر ۔ دلمیں۔ سہسا ۔ فکر مندی (7) انت کال بوقت آخرت ۔ جو دیسے ۔ دکھائی دیتا ہے ۔ میئیا ۔ مہربانی ۔ آد پرکھ ۔ جو آغاز عالم اتنا وسیع کہ کنارہ نہیں ایسے خدا کا نام دلمیں بسانے سے کامیابی حاصل ہوتی ہے (8) بھے ساگر اسرال پیا۔ بھے ۔ خوف۔ سلگر ۔س مندر ۔ا سرال ۔ اژدہا۔ کٹنب ۔ قبیلہ ۔ گریہہ ۔ گھر ۔ ساکت ۔ مادہ پرست ۔ جنجال۔ خانہ داری کا پھندہ۔ پرال ۔ پرالی ۔ بیکار گھاس (9) آئے ۔ پیدا ہوئے ۔ تنہے پٹھائے ۔ اسی نے بھیجے ۔ بخشنہارے ۔ بخشنے والے نے (10) چاکھیا۔ لطف اٹھائیا۔ رسائن ۔ لطفوں کا گھر۔ تنگت ۔ ساتھ ۔ صحبت و قربت ۔ کھوج ۔ تلاش کر ۔ جستجو ۔ ردھ سدھ ۔ بدھ ۔ معجزے و عقل و علم ۔ مکت۔ آزادی ۔ پدارتھ ۔ نعمت (11) ہرکھ ۔ سوگ۔ خوشی۔ غمی ۔ برکت۔ بیلاگ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ آپ مار۔ خودی مٹا کر۔ سہج سمائے ۔ روحانی سکون میں محو ومجذوب ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان اپنی صحبت اور تندرستی و سرمایہ دیکھ کر مغرور ہوگیا ہے ۔ سونے اور عورت سے زیادہ پیار کرتا ہے سچ و حق و حقیقت الہٰی نام بھلا کر گمراہ ہو رہا ہے (1) رہاؤ ۔ اے انسان جیسے عالم میں آئیا ہے پیدا ہوا ہےو یسے ہی یہاں سے رخصت ہو جائیگا۔ اے نادان جیسے تو نے جنم لیا ہے اسی طرحس ے موت بھی واقع ہوگی ۔ جس طرحس ے دنیاوی نعمتوں کا لطف لیتا ہے ۔ ایسے ہی اور اتنے ہی عذاب پاؤ گے ۔ اے انسان الہٰی نام سچ حق و حقیقت کو بھلا کر زندگی کے خوفناک سمندر کے بھنور میں پھنسے رہو گے (1) نہ شہوت سے پرہیز کیا نہ بلند اخلاق بنائیا نہ پرہیز گار اپنائی نہ شرافت اور نیکی اپنائی اور بد روحوں کی طرح لکڑی کی مانند سخت دل ہوگیا ہے ۔ نہ ثواب نہ خیرات نہ زیارت نہ پرہیز گاری اور ضبط نہ نیک پارساؤں پاکدامنوں کی صحبت و قربت کے بغیر زندگی بیفائدہ بیکار چلی جائیگی (2) اے انسان دولت کے لالچ میں کے لگا ہوا ہے ۔ اس کے لئے دور دہوپ میں مصروف زندگی بیکار جا رہی ہے ۔ سچ اور حقیقت الہٰی نام بھلا رکھا ہے جب موت تجھے پٹکائے گی تو تجھے ہوش نہ رہیگی موت کے منہ میں چلا جائیگا (3) دن رات دوسروں کی برائیاں کرتا ہے ۔ حسد بغض اور کینے میں مصروف ہے نہ دل میں الہٰی نام ہے نہ رحمدلی بغیر سبق و کلام مرشد بلند اخلاق روحانی چال چلن حاصل نہ ہوگا ۔ نہ ہی عزت و یہ برو پائیگا الہٰی نام سچ حق و حقیقت کے بغیر دوزخ نصیب ہوگا (4) مداری بھہر و پیئے کی طرح ہر طرف دنیاوی دولت کا پھیلاؤ دیکھ کر اس کی محبت میں محو ہو رہا ہے (5) اے انسان بد کاریاں او ر برائیاں پھیلاتا ہے ۔ ہوش و عقل او ر واعظ مرشد کے بغیر بھٹکتا ہے اور تو خودی کی بھاری بیماری میں مبتلا ہے ۔ سبق و واعظ مرشد حاصل ہو نے پر یہ بیماری دور ہوگی (6) آرام و آسائش سرمایہ جب آتا دیکھتا ہے تو غرور کرتا ہے مگر جس نے یہ دولت بخشی ہےو ہ واپس لے بھی لیتا ہے ۔ تو فکر مندی کا عذاب پاتا ہے (7) بوقت اخرت کچھ بھی ساتھ نہیں جاتا جو کچھ دکھائی دے رہا ہے سارا الہٰی کرم و عنایت سے ہے ۔ خدا ہی ساری قائنات کی بنیاد ہے ۔ جس کی وسعتوں کا اندازہ نہیں ہو سکتا لہذا اس خدا کا نام سچ حق و حقیقت دلمیں بسانےسے ہی کامیابی حاصل ہوتی ہے (7) جو فوت ہو چکا ہے اسکو روکر کسے سناتا ہے یہ زندگی بھاری ازدہے اور سمندر کی مانند ہے اے انسان تو دولت کی محبت کی گرفت میں اپنےقبیلے خاندان سرمایہ اور محلات دیکھ کر اس دنیاوی زندگی کے پھندے کی گرفت میں ہے (9) انسان کو اس دنیا میں خدا ہی بھیجتا ہے ۔ جب بلاوا آتا ہے تو چلا جاتا ہے خدا جو چاہتا ہے کرتا ہے وہ بخشنے کی توفیق رکھتا ہے بخشش لیتا ہے (10) جس نے الہٰی لطف کا مزہ لے لیا اے انسان اس کی صحبت کی تلاش کر۔ الہٰی نام کی نعمت مرشد سے حاصل ہوتی ہے اور الہٰی نام سچ حق و حقیقت میں تمام معجزے بلند عقل صراط مستقیم زندگی کی سمجھ نام میں مضمر ہے اور نام سے دنیاوی دولت کی غلامی سے نجات حاصل ہوتی ہے (11) مرید مرشد عذاب و آسائش کو ایک ہی یا برابر سمجھتا ہے ۔ غمی اور خوشی کو برابر خیال کرتا ہے بیلاگ رہتا ہے ۔ مرید مرشد ہوکر خودی مٹا کر وصل خدا ہوتا ہے ۔ اے نانک ۔اور اس سے تب روحانی سکون ہوتا ہے ۔

رامکلیِدکھنھیِمہلا੧॥
جتُستُسنّجمُساچُد٘رِڑائِیاساچسبدِرسِلیِنھا॥੧॥
میراگُرُدئِیالُسدارنّگِلیِنھا॥
اہِنِسِرہےَایکلِۄلاگیِساچےدیکھِپتیِنھا॥੧॥رہاءُ॥
رہےَگگنپُرِد٘رِسٹِسمیَسرِانہتسبدِرنّگیِنھا॥੨॥
ستُبنّدھِکُپیِنبھرِپُرِلیِنھاجِہۄارنّگِرسیِنھا॥੩॥
مِلےَگُرساچےجِنِرچُراچےکِرتُۄیِچارِپتیِنھا॥੪॥
ایکمہِسربسربمہِایکاایہستِگُرِدیکھِدِکھائیِ॥੫॥
جِنِکیِۓکھنّڈمنّڈلب٘رہمنّڈاسوپ٘ربھُلکھنُنجائیِ॥੬॥
دیِپکتےدیِپکُپرگاسِیات٘رِبھۄنھجوتِدِکھائیِ॥੭॥
سچےَتکھتِسچمہلیِبیَٹھےنِربھءُتاڑیِلائیِ॥੮॥
موہِگئِیابیَراگیِجوگیِگھٹِگھٹِکِنّگُریِۄائیِ॥੯॥
نانکسرنھِپ٘ربھوُکیِچھوُٹےستِگُرسچُسکھائیِ॥੧੦॥੮॥
لفظی معنی:
جت ۔ شہوت پر ضبط۔ ست۔ بلند اخلاق ۔ نیک و بلند چال چلن ۔ سنجم۔ پرہیز گاری ۔ ساچ ۔ صدیوی خدا۔ سبد۔ کلام۔ رس ۔ لطف۔ مزہ (1) دیال۔ مہربان۔ سدارنگ ۔ ہمیشہ پریم پیار۔ اہنس ۔ دن رات ۔ لو ۔ سرتی ۔ دھیان۔ پتینا۔ یقین (1) رہاؤ۔ گگن ۔ آسمان۔ یہاں مراد ذہن سے ہے ۔ بلند روحانی حالت۔ درسٹ ۔ نظریہ نگاہ ۔ سمسر ۔ سمے ۔ ایک سی ۔ سم۔ برابر۔ سر۔ ایک سی ۔ انہت سبد۔ بے آواز کلام۔ ان آوت۔ بے آواز (2) ست ۔ بندھ۔ بلندا خلاق ۔ وچال چلن۔ کوپین ۔ لنگوٹا۔ بھر پر۔ سرب دیا پک ۔ سب میں بسنے والے ۔ جہو۔ زبان۔ رنگ رسینا۔ پریم سے پر لطف (3) ملے گر سا چے ۔س چے مرشد کے ملاپ سے ۔ جن رچ۔ رچ راچے ۔ جس نے یہ قائنات قدرت پیدا کی ہے ۔ کرت وچار۔ اس کے کام کو سوچ کر۔ پتینا ۔ یقین آتا ہے (4) دیکھ دکھائی ۔ خود دیکھ دکھائیا (5) برہمنڈ۔ سارا عالم ۔ لکھن۔ بیان نہیں ہو سکتا (6) دیپک تے تیپک پر گاسیا۔ دیئے سے دیا ۔ روشن کیا۔ تربھون ۔ تینوں عالموں میں۔ جوت ۔ نور (7) سچے تخت ۔ صدیوی گدی یا تخت۔ سچے محلی ۔ صدیوی محلات یا ٹھکانے ۔ نہر بھو تاڑی ۔ بیخوفی دھیان (8) موہ گیا بیراگی جوگی ۔ طارق جوگی نے اپنی محبت کی گرفت میں لے لیا ۔ گھٹ گھٹ کنگری باجی ۔ ہر ایک کے دلمیں روحانی زندگی کی روجاری کی (9) ستگر سچ سکھائی سچا مرشد سچا ساتھی ہے (10)
ترجمہ معہ تشریح:
میرا مرشد مہربان ہے ہمیشہ پریم پیار میں محو ومجذوب رہتا ہے ہمیزہ ہر روز واحد خدا میںاپنا دھیان لگائے رکھتا ہے اور دیدار سے محظوظ رہتا ہے (1) شہوت پر ضبط ۔ بلند اخلاق وچال چلن برائیوں سے پرہیز ( پرہیز گاری سچے کلام کلام کا لطف اُٹھانا ۔ پکا کرائیا ہے (1) رہاؤ۔ ذہن اور دل و میں برابری کا نقطہ نگاہ و نظریہ اور روحانی سکون اور کلام کے پیار میں محو ومجذوب (2) بلند اخلاق و آچار کا لنگوٹا باندھ کر ہر جگہ بسنے ولالے خدا کی یاد میں محو رہتا ہے ۔ اور زبان الہٰی محبت میں پر لطف رہتی ہے (3) جس نے یہ قائنات پیدا کی ہے ہمیشہ الہٰی ملاپ کرتا ہے اور اس کے پیدا کئے ہوئے کو سمجھ کرا س میں یقین بناتا ہے (4) خلق منہ خالق بسیہہ رب ماہے ۔سچا مرشد دیدار کرا دیتا ہے (5) واحد خدا میں ساری قائنات قدرت و خلقت اور ساری قائنات قدرت و خلقت میں بستا ہے ۔ خدا ۔ اس کی شکل وصورت بیان نہیں ہو سکتی (6) خدا نے اپنی روحانی طاقت سے یا روشنی سے روشنی بانٹی جو تینوں عالموں میں روش ہے مراد اپنی روشن شجر سےدوسروں کی ضمیر روشن کی ۔ مرشد نے اس جوت یا روشنی کا دیدار کرائیا (7) سچے صدیوی تخت پر جلوہ افروز اور سچے سدیوی محلات میں بیخوف دھیان لگا رکھا ہے (8) دنیاوی دولت سےب ے نیاز طارق الدنیا ہر دلمیں روحانی روشنی دے رہا ہے (9) اے نانک نجات یا ذہنی یا دنیاوی غلامی سے نجات تو خدا دیتا ہے وہ خدا مرشد کا سچا دوست ہے ۔

رامکلیِمہلا੧॥
ائُہٹھِہستمڑیِگھرُچھائِیادھرنھِگگنکلدھاریِ॥੧॥
گُرمُکھِکیتیِسبدِاُدھاریِسنّتہُ॥੧॥رہاءُ॥
ممتامارِہئُمےَسوکھےَت٘رِبھۄنھِجوتِتُماریِ॥੨॥
منسامارِمنےَمہِراکھےَستِگُرسبدِۄیِچاریِ॥੩॥
سِنّگنْیِسُرتِاناہدِۄاجےَگھٹِگھٹِجوتِتُماریِ॥੪॥
پرپنّچبینھُتہیِمنُراکھِیاب٘رہماگنِپرجاریِ॥੫॥
پنّچتتُمِلِاہِنِسِدیِپکُنِرملجوتِاپاریِ॥੬॥
رۄِسسِلئُکےاِہُتنُکِنّگُریِۄاجےَسبدُنِراریِ॥੭॥
سِۄنگریِمہِآسنھُائُدھوُالکھُاگنّمُاپاریِ॥੮॥
کائِیانگریِاِہُمنُراجاپنّچۄسہِۄیِچاریِ॥੯॥
سبدِرۄےَآسنھِگھرِراجاادلُکرےگُنھکاریِ॥੧੦॥
کالُبِکالُکہےکہِبپُرےجیِۄتموُیامنُماریِ॥੧੧॥
ب٘رہمابِسنُمہیساِکموُرتِآپےکرتاکاریِ॥੧੨॥
کائِیاسودھِترےَبھۄساگرُآتمتتُۄیِچاریِ॥੧੩॥
گُرسیۄاتےسداسُکھُپائِیاانّترِسبدُرۄِیاگُنھکاریِ॥੧੪॥
آپےمیلِلۓگُنھداتاہئُمےَت٘رِسناماریِ॥੧੫॥
ت٘رےَگُنھمیٹےچئُتھےَۄرتےَایہابھگتِنِراریِ॥੧੬॥
گُرمُکھِجوگسبدِآتمُچیِنےَہِردےَایکُمُراریِ॥੧੭॥
منوُیااستھِرُسبدےراتاایہاکرنھیِساریِ॥੧੮॥
بیدُبادُنپاکھنّڈُائُدھوُگُرمُکھِسبدِبیِچاریِ॥੧੯॥
گُرمُکھِجوگُکماۄےَائُدھوُجتُستُسبدِۄیِچاریِ॥੨੦॥
سبدِمرےَمنُمارےائُدھوُجوگجُگتِۄیِچاریِ॥੨੧॥
مائِیاموہُبھۄجلُہےَاۄدھوُسبدِترےَکُلتاریِ॥੨੨॥
سبدِسوُرجُگچارےائُدھوُبانھیِبھگتِۄیِچاریِ॥੨੩॥
ایہُمنُمائِیاموہِیاائُدھوُنِکسےَسبدِۄیِچاریِ॥੨੪॥
آپےبکھسےمیلِمِلاۓنانکسرنھِتُماریِ॥੨੫॥੯॥
لفظی معنی:
اؤہٹھ ۔د ل میں ۔ قلب ۔ بہست ۔ ہاتھ ۔ مڑی ۔ جسم۔ چھائیا۔ بنائای۔ دھرن۔ دھرتی ۔ گگن ۔ آسمان ۔ کل ۔ طاقت۔ دھاری ۔ بنائیا (1) کیتی ۔ کس نے ہی ۔ سبد۔ کلام ۔ سبق ۔ واعظ ۔ اُدھاری ۔ بچائے ۔ سنتہو۔ روحانی رہبرو (1) رہاؤ۔ سوکھے ۔ جذب کر دیتا ہے ۔ ختم کر دیتا ہے ۔ ممتا ۔ ملکیت کی ہوس۔ تربھون۔ تینوں علاموں میں۔ جوت تماری ۔ تیرا ہی نور ہے (2) منسا۔ ارادہ ۔ منے ماہے ۔ ذہن نشین۔ ستگر سبد وچاری۔ کلام مرشد کی سمجھ (3) سنگھی ۔ طوطی ساز۔ سرت۔ ہوش ۔ انا حد ۔ لگاتار۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں۔ جوت ۔ نور (4) پرپنچ ۔ پیدائش قائنات و قدرت عالم۔ بین ۔ بانی ۔ کلام۔ برہم اگن ۔ الہٰی قوت۔ الہٰی نور۔ پر جاری ۔ روشن کر رکھی ہے (5) پنچ تت۔ پانچ بنیادی مادیات۔ اہنس۔ روز و شب۔ دیپک جوت نور۔ نرمل۔ پاک ۔جوت اپاری ۔ بیشمار نور (6) روسس ۔ چاند اور سورج ۔ لو کے ۔ تونیا۔ ایہہ۔ تن ۔ یہ جسم۔ سبد نراری نرالا۔ انوکھا کلام (7) سونگری ۔ روحانی ملک ۔ اودہو۔ اے طارق الدنیا ۔ بیراگی ۔ سنیاسی ۔آسن۔ ٹھکانہ ۔ا لکھ ۔ سمجھ سے باہر۔ اگم ۔ انسانی عقل و ہوش سے اونچا۔ اپاری ۔ اتنا وسیع کہ کنارہ نہیں (8) کائیا لگری ۔ جسمانی شہر ۔ پنچ وسیہہ ۔ بچاری ۔ پانچ اعضائے احساس ۔ راجہ ۔ حکمران (9) شبد روے ۔ کلام کے ذریعے تعریف کرتا ہے ۔ آسن گھر راجا۔ تخت نشین ہوکر ۔ عدل۔ انصاف۔ گنکاری ۔ با اوصاف ۔ (10) کال بکال ۔ جنم و موت ۔ بپرے ۔ بچارے ۔ جیوت ہوا۔ دوران حیات موت۔ من پر قابو پالینے سے ۔ مراد برائیوں اور برے خیالات سے پرہیز گاری ہی دوران حیات موت ہے (11) برہما۔ بشن مہیش اک مورت ۔ مراد ایک تصویر ہے ۔ آپے ۔ کرتا کاری کرنے والا ہے خود خدا (12) کائیا سودھ ۔ جسم پاک کرکے ۔ ترے بھوساگر ۔ زندگی کے خوفناک سمندر کو عبور کیا جاسکتا ہے ۔ آتم تت۔ روھانیت کی بنیاد ۔ اصلیت (13) انتر۔ دلمیں۔ سبد رویا۔ کلام بسئیا ۔ گنکاری ۔ باوصف (12) گن داتا۔ اوصاف بخشنے والا۔ ہونمے ۔ خودی ۔ ترسنا۔ خواہشات کی بھوک (15) ترے گن میٹے ۔ تینوں وصف ترقی یا حکومت کی خواہش۔ طاقت یا قوت حاصل کرنے کی خواہش ۔ طمعو ۔ لالچ۔ ختم کئے ۔ چوتھے ۔ وہ روحانی رتبہ جہاں ان تینوں اوصاف کا اثر زائل ہوجاتا ہے ۔ اور انسان سچ حق و حقیقت اور روحانیت میں زندگی بسر کرتا ہے ۔ ایہا بھگت نراری یہی انوکھا عشق خدا ہے (16) گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ جوگ سبد ۔ روحانیت کی جستجو کرنے والے ۔ آتم چینے ۔ روحانیت کی تلاش پہچان (17) منوآ استھر۔ مستقل مزاج من ۔ سبدے راتا۔ سبق و کلا م میں محو۔ کرنی ساری ۔ اصل اعمال۔ وید۔ مذہبی فلسفے کی کتابییں۔ باد۔ بحث مباحثے ۔ پاکھنڈ۔ دکھاوا ۔ اودہو ۔ طارق جوگی ۔ گورمکھ ۔ سبد وچاری ۔ مرید مرشد ہوکر کلام کو سمجھ (19) جوگ ۔ روحانی واخلاقی طرز زندگی کا فلسفہ ۔ جت ۔ شہوت پر ضبط۔ ست۔ سچ حقیقت پرستی ۔ سبد وچاری کلام سمجھ ۔ سوچ (20) سبد مرے ۔ سبق واعظ و کلام سے مرتا ہے مراد زیر ضبط ہوتا ہے ۔ من مارے ۔ مراد من پر قابو پانا یا زیر ضبط کرنا ہے نہ کہ ختم کرنا ۔ جوگ جگت ویچاری۔ روحانی طرز زندگی کو سمجھنا (21) مائیا موہ بھوجل ہے ۔ دنیاوی دولت ز ندگی کے لئے سمند رمیں طوفانی بھنور کی مانند ہے (22) سبد سور۔ کلام کے بہادر بانی ۔ بچن ۔ بول ۔ کلام۔ سبق۔ بھگت وچاری ۔ عشق الہٰی کی سمجھ (23) مائیا موئیا۔ دنیاوی دولت کی محبت کی گرفت میں۔ نکسے ۔ نکالتا ہے ۔ آزاد ہوتا ۔ سبد وچاری ۔ کالم کو سمجھ کر (24) بخشے ۔ بخشا۔ میل ملائے ۔ ملاپ کراتا ہے ۔ سرن ۔ پناہ (25)
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبر سنتہو کتنے ہی کو مرید مرشد سبق واعظ و کلام سے برائیوںس ے بچاتا ہے (1) رہاؤ۔ جس کےس ہارے زمین وآسمان قائم ہے خدا انسانی دل کو اپنی رہائش کے لئے گھر بنالیتاہے ہے (1) وہ خوئشتا ختم کرکے خودی مٹا دیتا ہے اسے تینوں عالموں میں الہٰی نور دکھائی دیتا ہے (2) وہ کلام مرشد کے ذریعے بلند خیالات کا مالک ہوجاتا ہے اور خیالات کی رؤ ختم کرکے ذہن نشین اور ورحانی سکون پاتا ہے (3) ہوش و سمجھ کی طوطی لگاتا ر اس کے دل میں بجتی ہے اور ہر دلمیں اسے الہٰی نطور نظر آتا ہے (4) عالمی پیدائش کی بین یا بنسری میں۔ اپنا دل لگاتا ہے اور الہٰی نور اس کے دل کو پر نور کر دیتا ہے (5) پانچ مادیات سے ملے ہوئے اور بنے ہوئے اس جسم میںد ن رات الہٰی نور کا پاک چراغ روشن رکھتا ہے (6) چاند اور سورج کی طرح اڑا اور پنگلا دوسریں ۔ ایک کنگری کے تو نبے کی طرح ہیں اس طرح تنتی مراد جسم سے نرالی اور انوکھی آواز پیدا ہورہی ہے (7) ذہن نشینی میں اے طارق ٹھکانہ ہے اس انسانی عقل و سمجھ سے بعید انسانی عقل و ہوش سے بلند اس وسعت سے باہر ہستی کا (8) انسانی جسم ایکش ہر کی طرح ہے جس میں پانچ اعضےٰ احساسات با عقل و شعور بستے ہیں اور یہ من ان پر حکمران ہے (9) اور طاقور ہوکر ذہن نشین رہتا ہے اور کلام مرشد پر عمل پیرا ہوکر یاد خدا میں محو رہتا ہے اور باوصف انصاف کرتا ہے ۔ (10) جیسے جی اپنے آپ کو بدکاریوں اور برائیوں کو چھوڑ کر من پر فتح حاصل کر لیتا ہے اور اپنے زیر کر لیتا ہے اور تناسخ مٹا لیتا ہے (11) خدا خود ہی کارساز کرتار ہے برہما ۔ وشنو اور شوجی اس کے خیال کار ندے ہیں (12) روحانی حقیقت کو سمجھکر اور جسمانی پاکیزگی بنا کر اس دنیاوی زندگی کے سمندر کو عبو ر کیا جسکتا ہے مراد زندگی کا میاب ہو سکتی ہے (13) اے طارق الدنیا خدمت مرشد سے ہی آرام وآسائش حاصل ہوتا ہے ۔ سبق مرشد پر عمل پیرا ہونے سے ہی روحانی سکون حاصل ہوسکتا ہے ۔ جس نے پالیا اس کے دل میں روحانی اوصاف پیدا کرنے والے کلام مرشد اس کے ذہن نشین ہوجاتے ہیں (14) اوصاف عنایت کرنے والا سختی خدا خود ہی ملاپ کراتا ہے ۔ خودی اور دنیاوی دولت کی ہوس مٹانے پر (15) تینوں اوصاف کے تاثرات ختم کرنے پر اسے روحانیت کا بلند ترین رتبہ حاصل ہوتا ہے ۔ یہی نرالی اور انوکھی بھگتی ہے جو کشش پاتی ہے (16) مرید مرشد کلام مرشد پر عمل کرکے روحانیت کے حصول کے لئے اپنی روحانی زندگی کی تحقیق و پڑتال کرتا رہتا ہے ۔ اور دل میں خدا بسائے رکھتا ہے (17) کلام میں محویت ہی اس کے اعمال کی بنیاد ہے ۔ جس سے اسکا دل مستقل مزاج ہوجاتا ہے (18) نہ مذہبی کتابیں نہ بحث مباحثے نہ دکھاوے ۔اے طارقبول ہوتے ہیں یہ تو روحانی زندگی کے راستے میں دکھاوے ہیں اور سمجھے جاتے ہیں ۔ کلام مرشد سے مرید مرشد ہوکر بلند روھانی خیالات والا ہو سکتا ہے (19) مرشد کے بتائے ہوئے سراط مستقیم پر عمل کرنا ہی روحانی عمل و حصول ہے اور کلام مرشد پر عمل سے ہی شہوت پر ضبط رکھنے سچائی پر خیالات آرائی اور سمجھنا ہے (20) سبق و کلام سے ہی من پر ضبط حاصل ہوتی ہے ۔ اے طارق اس سے روحانیت کی کی سمجھ آتی ہے (21) اے طارق دنیاوی دولت کی محبت ایک بھنور ہے کلام سے اور اس پر عمل کرکے خود ہی نہیں اپنے خاندان کو بھی کامیابی حاصل ہوجاتی ہے (22) کلامی ماہر بہادر ہر دور زماں میں بہادری پاتے ہیں جو انسان کلام مرشد اپناتے ہیں وہ ہر دور زماں بہادر ہیں اور کلام مرشد کی برکت سے الہٰی عشق اپنے ذہن میں بسا کر رکھتے ہیں (23) یہ دل جب دنیاوی دولت کی محبت میں گرفتار ہوجاتا ہے تو اے طارق کلام کو سمجھ کر اس پر عمل کرنے سے نجات حاصل ہوتی ہے (24) اے نانک ۔ وہ خودہی ملاپ اور میل سے بخشتا ہے نانک تیرے زیر پناہ ہے ۔

رامکلیِمہلا੩اسٹپدیِیا
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
سرمےَدیِیامُنّد٘راکنّنیِپاءِجوگیِکھِنّتھاکرِتوُدئِیا॥
آۄنھُجانھُبِبھوُتِلاءِجوگیِتاتیِنِبھۄنھجِنھِلئِیا॥੧॥
ایَسیِکِنّگُریِۄجاءِجوگیِ॥
جِتُکِنّگُریِانہدُۄاجےَہرِسِءُرہےَلِۄلاءِ॥੧॥رہاءُ॥
ستُسنّتوکھُپتُکرِجھولیِجوگیِانّم٘رِتنامُبھُگتِپائیِ॥
دھِیانکاکرِڈنّڈاجوگیِسِنّگنْیِسُرتِۄجائیِ॥੨॥
منُد٘رِڑُکرِآسنھِبیَسُجوگیِتاتیریِکلپنھاجائیِ॥
کائِیانگریِمہِمنّگنھِچڑہِجوگیِتانامُپلےَپائیِ॥੩॥
اِتُکِنّگُریِدھِیانُنلاگےَجوگیِناسچُپلےَپاءِ॥
اِتُکِنّگُریِساںتِنآۄےَجوگیِابھِمانُنۄِچہُجاءِ॥੪॥
بھءُبھاءُدُءِپتلاءِجوگیِاِہُسریِرُکرِڈنّڈیِ॥
گُرمُکھِہوۄہِتاتنّتیِۄاجےَاِنبِدھِت٘رِسناکھنّڈیِ॥੫॥
ہُکمُبُجھےَسوجوگیِکہیِئےَایکسسِءُچِتُلاۓ॥
سہساتوُٹےَنِرملُہوۄےَجوگُجُگتِاِۄپاۓ॥੬॥
ندریِآۄداسبھُکِچھُبِنسےَہرِسیتیِچِتُلاءِ॥
ستِگُرنالِتیریِبھاۄنیِلاگےَتااِہسوجھیِپاءِ॥੭॥
ایہُجوگُنہوۄےَجوگیِجِکُٹنّبُچھوڈِپربھۄنھُکرہِ॥
گ٘رِہسریِرمہِہرِہرِنامُگُرپرسادیِاپنھاہرِپ٘ربھُلہہِ॥੮॥
اِہُجگتُمِٹیِکاپُتلاجوگیِاِسُمہِروگُۄڈات٘رِسنامائِیا॥
انیکجتنبھیکھکرےجوگیِروگُنجاءِگۄائِیا॥੯॥
ہرِکانامُائُکھدھُہےَجوگیِجِسنومنّنِۄساۓ॥
گُرمُکھِہوۄےَسوئیِبوُجھےَجوگجُگتِسوپاۓ॥੧੦॥
جوگےَکامارگُبِکھمُہےَجوگیِجِسنوندرِکرےسوپاۓ॥
انّترِباہرِایکوۄیکھےَۄِچہُبھرمُچُکاۓ॥੧੧॥
ۄِنھُۄجائیِکِنّگُریِۄاجےَجوگیِساکِنّگُریِۄجاءِ॥
کہےَنانکُمُکتِہوۄہِجوگیِساچےرہہِسماءِ॥੧੨॥੧॥੧੦॥
لفظی معنی:
سرمے ۔ محنت ومشقت ۔ کھنتھا۔ گننی ۔ چوغا۔ گودڑی ۔ جن لئیا ۔ جیت لیا ۔ فتح پائی ۔ آون جان ۔ تناسخ (1) کنگری ۔ تونی ۔ دینا ۔ جت ۔ جس سے ۔ انحد ۔ لگاتار ۔ (1) رہاؤ۔ ست ۔ سچ ۔ سنتوکھ ۔ صبر۔ پت ۔ عزت۔ انمرت نام۔ آبحیات سچ حق وحقیقت ۔ بھگت ۔ کھانا ۔ دھیان ۔ توجہی ۔ سرت۔ ہوش (2) آسن۔ ٹھکانہ ۔ بیس ۔ بیٹھ ۔ درڑ۔پختہ ۔ پکا۔ کلپنا۔ دلی جھگڑا۔ کائیا نگری ۔جسمانی شہر(3) ات۔ اسطرح ۔ سچ ۔ حقیقت۔ جو صویوی ہے ۔ پلے ۔ دامن ۔ ابھیمان ۔ غرور (4) بھوبھاؤ۔ خوف دپیار ۔ دوئے ۔ دونوں۔ سریر ۔ جسم۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ ان بدھ ۔ اسطرحسے ۔ ترسنا۔ خواہشات کی پیاس۔ کھنڈی ۔ مٹی ہے (5) حکم بوجھے رضائے الہٰی۔ سہسا۔ فکر ۔ تشویش۔ توٹے ۔ ختم ہو۔ چت ۔ دل ۔ نرمل۔ پاک (6) ندری آودا۔ جو نظر آتا ہے ۔ ونسے ۔ مٹ جائیگا ۔ ہر سیتی ۔ خدا کے ساتھ ۔ چت لگائے ۔ دل لگائے ۔ بھاونی ۔ یقین پیار (7) پربھون۔ جگہ جگہ پھرتے رہتا۔ گریہہ سر یر ۔ جسمانی گھر ۔ گر پر سادی ۔ رحمت مرشد سے ۔ ہر پربھ لہے ۔ خدا کو پالیگا (8) ترسنا مائیا۔ دولت کی بھوک ۔ سرمائے کی پیاس۔ جتن ۔ کوشش۔ بھیکھ ۔ لباسی وکھاوا۔ روگ ۔ بیماری (9) اوکھد ۔ دوائی۔ جوگ جگت۔ روحانیت کا طریقہ ۔ الہٰی ملاپ کا طریقہ (10) وکھم ۔ دشوار۔ ندر۔ نظر عنایت و شفقت۔ انتر باہرا۔ اپنے دل اور دنیا میں۔ بھرم۔ چکھائے ۔ وہم وگمان مٹائے (11) دن بجائے کنگری وابے ۔ ایسی کنگری بجتی جو بغیر بجائے بجتی ہے ۔ مکت ۔ نجات ۔ آزادی ۔ ساچے رہے سمائے ۔ خدا میں جو صدیوی ہے میں محو ومجذوب رہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے جوگی ایسی بین بجا جس کے بجانے سے الہٰی نگن محبت پیار اور پریم ہوجائے (1) رہاؤ ۔ اے جوگی محنت و مشقت کرنے کی عادت کی مندراں کانوں میں ڈال اور رحمدلی کو اپنی کفتی بنا اور موت وپیدائش کی یاداشت کی ببھوت سمجھ تو سمجھ لے کہ تینوں عالموں کو جیت لیا ہے ۔ سچ صبر اور عزت کو جھولی سمجھ اور الہٰی نام سچ و حقیقت کو اپنا کھانا میں دھیان لگانے توجہ دینے کو اپنا ڈندآ سمجھ عقل و ہوش کو تنگی بجانا خیال کر (2) اے جوگی مستقل مزاج ہوکر اپنے ٹھکانے بیٹھ تب ہی تیرے دل کا عذاب دور ہوگا اپنے جسم سے ہی مانگ تب تو الہٰی نام سچ و حقیقت تیرے دامن اور جھولی پڑیگا (3) مگر اے جوگی تیری اس کنگری سے نہ دھیان لگتا ہے نہ صدیوی سچ و حقیقت حاصل ہوگی نہ سکون حاصل ہوگا نہ غرور جائیگا (4) اے جوگی اس جسم کو ڈنڈی جان اور اس کے ساتھ الہٰی خوف اور پیار کے دو تو نیسے لگا ۔ مرید مرشد ہوکر تار بجتی ہے اس طریقے سے خواہشات کی پیاس بجھتی ہے (5) جو رضائے الہٰی کو سمجھتا ہے وہی جوگی کہلا سکتا ہے جس کی واحد خدا سے پریم پیار ہو ۔ فکر و تشویش مٹا کر پاک ہوجانے سے اور جانیپر الہٰی ملاپ اور روحانی طرز زندگی کا پتہ چلتا ہے (6) اے جوگی جو کچھ نظر آرہا ہے ۔ مٹ جائیگا ختم ہو جائیگا ۔ اگر سچے مرشد پر یقین لائیگا تبھی سمجھ آئیگی (7) جو شخص اپنا خاندان یا قبیلہ پریوار چھوڑ کر باہر چلتا پھرتا ہے وہ جوگی نہیں کہلا سکتا ۔ اسی جسمانی گھر میں الہٰی نام سچ و حقیقت رحمت مرشد سے پا سکتے ہو (8( یہ عالم سمجھو مٹی یا خاک کا بت ہے ۔ اسمیں دنیاوی دولت کی خواہشات کی پیاس کی بھاری بیماری لگتی ہے ۔ بیشمار کوششوں کے باوجود یہ بیماری نہیں مٹتی (9) اس کے لئے الہٰی نام سچ حق و حقیقت نام ایک دوائی ہے ۔ جس نے دلمیں بسائیا ہے ۔ مرید مرشد ہوکر سمجھے وہی الہٰی ملاپ کا طور طریقہ سمجھ جاتا ہے ۔ (10) الہٰی ملاپ اور روحانی زندگی بسر کرنے کا طور طریقہ نہایت دشوار ہے ۔ جس پر الہٰی نظر عنایت ہوتی ہے وہی پاتا ہے ۔ اپنے ذہن و قلب اندرونی طور پر اور بیرونی دنیا میں اپنےد لی وہم وگمان دور کرکے واحد خدا پر توقع اور نظر ہو (11) اے جوگی ایسی تونی یا کنگری بجا جو بغیر بجاانےس ے بجا ۔ مراد روحانی سنگیت جو الہٰی نام سچ و حقیقت سے بجتی ہے بجا۔ اے نانک اس سے برائیوں بدکاریوں کی غلامی سے نجات حاصل ہوتی ہے ۔ سچے اور صدیوی سچ میں محوویت ملتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੩॥
بھگتِکھجاناگُرمُکھِجاتاستِگُرِبوُجھِبُجھائیِ॥੧॥
سنّتہُگُرمُکھِدےءِۄڈِیائیِ॥੧॥رہاءُ॥
سچِرہہُسداسہجُسُکھُاُپجےَکامُک٘رودھُۄِچہُجائیِ॥੨॥
آپُچھوڈِناملِۄلاگیِممتاسبدِجلائیِ॥੩॥
جِستےاُپجےَتِستےبِنسےَانّتےنامُسکھائیِ॥੪॥
سداہجوُرِدوُرِنہدیکھہُرچناجِنِرچائیِ॥੫॥
سچاسبدُرۄےَگھٹانّترِسچےسِءُلِۄلائیِ॥੬॥
ستسنّگتِمہِنامُنِرمولکُۄڈےَبھاگِپائِیاجائیِ॥੭॥
لفظی معنی:
بھگت ۔ا لہٰی عشق و پیار کا خزناہ ۔ گورمکھ جاتا۔ مرید مرشد نے پہچان کی ۔ ستگر بوجھ بجھائی۔ سچے مرشد نے اس بجھارت کو سمجھیا (1) وڈیائی ۔ عظمت و شہرت(1) رہاؤ۔ سچ ۔ صدیوی سچا خدا۔ سہج سکھ ۔ روحانی سکون یا ذہنی سکون ۔ کام کرودھ ۔ وچہو جائی ۔ دل سے شہوت اور غصہ ختم ہوجاتا ہے (2) آپ چھوڈ خودی مٹآ کر ۔ نام لو ۔ سچ و حقیقت میں دھیان ۔ ممتا۔ ملکیت کی ہوس۔ سبد جلا۔ سبق و کلام سے ختم کی (3) اپجے پیدا ہوئے ۔ ونسے ۔ مٹے ۔ انتے ۔ آخر کار ۔ سکھائی۔ ساتھی ۔ مددگار (4) سدا حضور۔ ہر وقت حاضر۔ رچنا ۔ بناوٹ۔ پیدائش (5) سچا سبد۔ سچا کلام ۔ روے گھٹ انتر۔ دلمیں بسا رہے ۔ رونے ۔ بسے ۔ گھٹ انتر۔ دلمیں۔ سچے سیو لو لائی ۔ سچے صدیوی خدا میں لگن اور محبت بنی رہے (6) ست سنگت ۔ صحبت پاکبازاں ۔ نام نرمولک ۔ الہٰی نام جس کی قیمت کا اندازہ یا مقرر قیمت نہیں ہو سکتی ۔ وڈے بھاگ ۔ بلند قسمت سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبرو ( سنتہو ) مرید مرشد ہوکر انسان کو توقیر و عزت حاصل ہوتی ہے (1) رہاؤ۔ الہٰی ملاپ کے خزانہ کی پہچان و قدرو قیمت کا پتہ بھی مرشد سے چلتا ہے ۔ سچا مرشد ہی اس بجھارت کو سمجھاتا ہے (1) صدیوی سچ سچے خدا میں محو ومجذوب رہتے سے ہمیشہ روحانی و ذہنی سکون و آرام و آسائش پیدا ہوتا شہوت اور غصہ مٹ جاتا ہے (2) خودی یا اپنت مٹآ کر سچ و حقیقت الہٰی نام سے لگن محبت و اپنانے سے ملکیت کی ہوس سبق و کلام سے جل جاتی ہے (3) جیو یا جاندار جس الہٰی حکم سے پیدا ہوتا ہے اسی کی حکم سے ختم ہو جاتا ہے ۔ بوقت اخرت الہٰی نام سچ حق و حقیقت ہی مددگار اور ساتھی رہتا ہے ۔ جس نے یہ عالم و قائنات پیدا کی ہے ۔ اُسے حاضر ناظر کہیں دور نہ دیکھو اور سمجھو (5) سچا کلام دل میں بستا ہے بساؤ سچے صدیوی خدا سے پیار کرؤ ۔ سچے پاکدامن ساتھیوں کی صحبت و قربت میں الہٰی نام سچ و حقیقت جو اپنا بیش قیمت ہے کہ اس کی قیمت مقرر نہیں کیا جا سکتی بلند قسمت سے حاصل ہوتا ہے ۔

بھرمِنبھوُلہُستِگُرُسیۄہُمنُراکھہُاِکٹھائیِ॥੮॥
بِنُناۄےَسبھبھوُلیِپھِردیِبِرتھاجنمُگۄائیِ॥੯॥
جوگیِجُگتِگۄائیِہنّڈھےَپاکھنّڈِجوگُنپائیِ॥੧੦॥
سِۄنگریِمہِآسنھِبیَسےَگُرسبدیِجوگُپائیِ॥੧੧॥
دھاتُرباجیِسبدِنِۄارےنامُۄسےَمنِآئیِ॥੧੨॥
ایہُسریِرُسرۄرُہےَسنّتہُاِسنانُکرےلِۄلائیِ॥੧੩॥
نامِاِسنانُکرہِسےجننِرملسبدےمیَلُگۄائیِ॥੧੪॥
لفظی معنی:
بھرم۔ نہ بھو لہو۔ وہم وگمان میں نہ رہو گمراہ نہ ہو ۔ من راھو اک ٹھائے ۔ دل ٹکاؤ ۔ مسقل مزاج رہو۔ (8) برتھا ۔ بیکار ۔ بیفائدہ (9) جگت گوائی ۔ روحانیت یا الہٰی ملاپ کا طریقہ گنوادیا ۔ ہنڈے ۔ بھٹکتا پھرتا ہے ۔ پاکھنڈ۔ دکھاوا۔ جوگ۔ روحانیت (10) شو نگری ۔ الہٰی شہر مراد سچے پاکدامن ساتھیوں کی صحبت و قربت۔ آسن بیسے ۔ ٹھکانہ بنا کر ۔ گر سبدی ۔ کلام و واعظ مرشد (11) دھاتر باجی ۔ دنیاوی دولت کے لئے ترود وتگ و دو ۔ سبد نوارے ۔ کلام دور کرتا ہے (12) سردر ۔ تالاب۔ اسنان ۔ غسل ۔ لو لائی ۔ محبت پیار سے (13) نام اسنان ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کی غسل سے جو پاک بناتے ہیں۔ اپنے ذہن و روح کو ۔ سے جن نرمل ۔ وہ ہیں پاک انسان ۔ سبدے میل گوائی۔ کلام سے ناپاکیزگی مٹاتے ہیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں گمراہ نہ ہو بھٹکن میں ڑ کر مستقل مزاج رہو (8) بغیر الہٰی نام کے سارے گمراہ ہو رہے ہیں۔ بیکار بیفائدہ زندگی گذر رہے ہیں (9) دکھاوے یا بھیس بنانے سےا لہٰی ملاپ اور روحانی زندگی نہیں ہو سکتی ۔ جوگی الہٰی ملاپ کا طریقہ گنوا کر بھٹکتا پھرتا ہے (10) الہٰی شہر مراد پاکدامن خدا رسیدہ عارفوں پارساؤں کی صحبت و قربت یا ذہن نشین ہوکر کلام مرشد کرکے روحانیت یا الہٰی ملاپ حاصل ہوتا ہے (11) دنیاوی دولت کے لئے تگ و دو اور دوڑ دہوپ واعظ و کلام سے مٹ جاتی ہے الہٰی نام سچ و حقیقت دلمیں بس جاتا ہے (12) یہ انسانی جسم ایک تالاب کی مانند ہے اور روحانی رہبر سنتہو ا س میں پیار ومگن سے غسل کرؤ (13) جو انسان الہٰی نام سچ و حقیقت سے غسل کرتا ہے وہ پاک انسان ہیں ان کی زندگی روحانی اخلاقی طور پر پاک ہے ۔ انہوں نے بدکاریوں اور برائیوں سےا پنی زندگی پاک بنالی ہے اور ناپاکیزگی دور کر لی ہے ۔

ت٘رےَگُنھاچیتنامُچیتہِناہیِبِنُناۄےَبِنسِجائیِ॥੧੫॥
ب٘رہمابِسنُمہیسُت٘رےَموُرتِت٘رِگُنھِبھرمِبھُلائیِ॥੧੬॥
گُرپرسادیِت٘رِکُٹیِچھوُٹےَچئُتھےَپدِلِۄلائیِ॥੧੭॥
پنّڈِتپڑہِپڑِۄادُۄکھانھہِتِنّنابوُجھنپائیِ॥੧੮॥
بِکھِیاماتےبھرمِبھُلاۓاُپدیسُکہہِکِسُبھائیِ॥੧੯॥
بھگتجناکیِاوُتمبانھیِجُگِجُگِرہیِسمائیِ॥੨੦॥
بانھیِلاگےَسوگتِپاۓسبدےسچِسمائیِ॥੨੧॥
لفظی معنی:
تریگن ۔ تینوں اوصاف والا انسان ۔ بلندی کی خواہش ۔ کرنے والے ۔ کو رج گن کہتے ہیں حسد۔ بغض کینہ غصہ کرنے والے کو تم گن ۔ جب بیراگ کرتا ہے ۔ دکھ سکھ اثر انداز نہیں ہوتے اسے ست ۔ گن کہتے ہیں ۔ اچیت ۔ بے سمجھ ۔ نام چیتے ناہی ۔ سچ و حقیقت یاد نہیں کرتا (15) نرکٹی ۔ تینوں اوصافوں کی غلامی ۔ گر پر سادی ۔ رحمت مرشد سے ۔ چوتھے پد ۔ تینوں اوصافوں سے زندگی کا بلند رتبہ جس میں انسان کو ذہنی قلبی مکمل طور پر سکون حاصل ہوتا ہے ۔ زندگی قدرت کی مطابق یا الہٰی رضا کی مطابق نیکیوں اور بھلائیوں میں گذرتی ہے ۔ جسے سہج پد سے موسوم کیا گیا ہے (17) برہما ۔ بش اور شوجی ترے مورت ۔ تینوں ۔ تریگن بھرم بھلائی ۔ مراد تینوں دیوے جنہوں دیوتے کہا جاتا ہے تینوں اوصاف ۔ رجو ستو طمعوں کے مخمسے الجھن میں محصور ہ ۔ (16) داد۔ جھگڑے ۔ بحث۔ تنا۔ انہیں (18) بکھیا مانے ۔ دنیاوی ( دنیاوی ) دولت کے نشے میں مخمور ۔ بھرم بھلائے ۔ وہم وگمان میں گمراہ (19) اُتم بنای ۔ نیک بلند کلام۔ جگ جگ رہی سمائی ۔ ہر زمانے میں اپنا اثر ڈالتی ہے (20) بانی لاگے ۔ جو کلام پر چلتا ہے ۔ سوگت پائے ۔ وہ زندگی کی بلندی پاتا ہے ۔ سبدے سچ سمائے ۔ اور کلام کی برکت سے الہٰی ملاپ پاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
زندگی گذارنے نے تینوں اوصاف بلندی کی خواہش غصہ اور حسد وغیرہ طاقت کا حصول کی خواہش کی وجہ سے غافل ہوکر الہٰی نام سچ و حقیقت سے بیخبر رہتا ہے لہذا بغیر سچ و حقیقت سے بیخبر روحانی اخلاقی وفات پا تا ہے ۔ برہما وشنو اور شوجی تینوں اوصاف زندگی جنکا پہلے ذکر کیا جا چکا ہے ۔ کے مکمل طور پر زیر اثررہے اور تینوں اوصاف کی وجہ سے بھٹکتے رہے اور گمراہ رہے الہٰی وصل نصیب نہ ہوا (16) تینوں اوصاف کی غلامی اور قید سے نجات رحمت مرشد زندگی کے چوتھے درجے سہج پد مراد روحانی سکون یا ذہن نشینی میں محو ومجذوب ہونے سے حاصل ہوتی ہے (17) پنڈت مذہبی کتابیں پڑہتے ہیں بحث مباحثے کرتے ہیں۔ مگر انہیں روحانی بلند زندگی کی سمجھ نہیں (18) جب وہ خود دنیاوی دولت کی محبت میں خود گمراہ ہیں پندو نصیحت و واعظ کس لئے کیسے (19) اے روحانی رہبر سنتہو ۔ الہٰی عاشقوں کا کلام خاص اہمیت رکھتا ہے اور وہ ہر دور زماں میں سب پر اپنے تاثرات ڈالتا ہے (20) اے روحانی رہبر سنتہو ۔ جو شخص کلام کو اپناتا ہے وہ بلند روحانی واخلاقی زندگی کا اونچار تبہ حاصل کر لیتا ہے اور کلام مرشد کے ذریعے الہٰی الحاق و وصل پا لیتا ہے ۔ اور اس میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔

کائِیانگریِسبدےکھوجےنامُنۄنّنِدھِپائیِ॥੨੨॥
منسامارِمنُسہجِسمانھابِنُرسنااُستتِکرائیِ॥੨੩॥
لوئِنھدیکھِرہےبِسمادیِچِتُادِسٹِلگائیِ॥੨੪॥
ادِسٹُسدارہےَنِرالمُجوتیِجوتِمِلائیِ॥੨੫॥
ہءُگُرُسلاہیِسداآپنھاجِنِساچیِبوُجھبُجھائیِ॥੨੬॥
نانکُایککہےَبیننّتیِناۄہُگتِپتِپائیِ॥੨੭॥੨॥੧੧॥
لفظی معنی:
کائیا نگری ۔ جسمانی شہر۔ سبد کھوبے ۔ کلام سے اس کی تحقیق کرئے ۔ مراد اس کے نیک و بد کی تمیز سمجھے ۔ نام نو ندھ پائی۔ سچ و حقیقت اور آرام و آسائش کے نو خزانے پاؤ گے (22) منسا۔ ارادہ ۔ مار ۔ ختم کرکے ۔ سہج ۔ روحانی وذہنی سکنو۔ بن رسنا۔ بغیر زبان ۔ اُستت۔ تعریف (23) لوئن ۔ آنکھیں۔ بسمادی ۔ حیران۔ حیرانگی میں ۔ چت۔ دل ۔ ادسٹ ۔ آنکھوں سے اوجھل (24) نرالم۔ بیلاگ۔ پاک ۔ جوتی جوت۔ نور میں نور (25) گر صالاحی ۔ مرشد کی تعریف ۔ ساچی بوجھ ۔ سچا علم ۔ سچی سمجھ ۔ بجھائی ۔ سمجھائی (26) بے بینتی ۔ عرض گذارش۔ نادہو ۔ نام سے ۔ سچ حق و حقیقت و اصلیت سے ۔ گت ۔ بلند روحانی حالت ۔ پت ۔ عزت۔ (27)
ترجمہ معہ تشریح:
جو انسان کلام سے ( انسان ) اپنے جسمانی کردار کی تحقیق اور پڑتال کرتا ہے مراد اپنے اعمال کے نیک و بد کو سمجھنے کی کوشش کرتا ہے وہ الہٰی نام سچ حق و حقیقت کا خزانہ دریافت کر لیتا ہے (22) دنیاوی دولت کے ارادے ترک کرکے اپنے دل کو روحانی سکون میں ٹکا لیتا ہے ۔ وہ بغیر زبان کے مراد بوے بغیر حمدوثناہ ہوتی ہے (23) انکھیں دیدار سے حیرت زدہ ہیں اور دل آنکھوں سے اوجھل خدا میں محو ومجذوب ہے (24) آنکھوں سے اوجھل خدا ہمیشہ پاک بیلاگ نور میں نور ملا رہتا ہے ۔ (25) میں ہمیشہ اپنے مرشد کی تعریف کرتا ہوں جس نے صدیوی سچے خدا کی سمجھ بخشی ہے اشنا کیا ہے (26) نانک عرض گذارتا ہے ۔ نام سچ و حقیقت سے ہی بلندروحانی واخلاقی حالت و عزت ملتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੩॥
ہرِکیِپوُجادُلنّبھہےَسنّتہُکہنھاکچھوُنجائیِ॥੧॥
سنّتہُگُرمُکھِپوُراپائیِ॥
ناموپوُجکرائیِ॥੧॥رہاءُ॥
ہرِبِنُسبھُکِچھُمیَلاسنّتہُکِیاہءُپوُجچڑائیِ॥੨॥
ہرِساچےبھاۄےَساپوُجاہوۄےَبھانھامنِۄسائیِ॥੩॥
پوُجاکرےَسبھُلوکُسنّتہُمنمُکھِتھاءِنپائیِ॥੪॥
سبدِمرےَمنُنِرملُسنّتہُایہپوُجاتھاءِپائیِ॥੫॥
پۄِتپاۄنسےجنساچےایکسبدِلِۄلائیِ॥੬॥
بِنُناۄےَہورپوُجنہوۄیِبھرمِبھُلیِلوکائیِ॥੭॥
لفظی معنی:
دلنبھ ۔ نایاب (1) گورمکھ ۔ مرید مرشد (1) رہاؤ۔ میلا۔ ناپاک۔ پوج چڑائی ۔ پرستش کے لئے بھینٹ کروں(2) ساچے بھاوے ۔ جو رضائےا لہٰی میں ہو ۔ بھانا ۔ رضا۔ من دلمیں۔ بسائی ۔ بساؤں۔ سب لوک ۔ سارا عالم ۔ منمکھ ۔ مرید من ۔ خودی پسند۔ تھائے ۔ ٹھکانہ (4) نرمل۔ پاک ۔ پوجا تھائے پائی ۔ پرستش قبول ہوئی ہے (5) پوت ۔ پاک ۔ پاون ۔ پاک ۔ سے جن وہ انسان لو ۔ لگن ۔ محبت (6) ناوے ۔ نام ۔ سچ و حقیقت ۔ بھرم بھلی لوکائی ۔ گمراہ ہو رہے ہیں لوگ (7)
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبر سنتہو مرید مرشد کامل خدا پا لیتا ہے ۔ وہ الہٰی نام سچ و حقیقت کی پرستش کراتا ہے (1) رہاؤ۔ الہٰی پرستش نایاب ہے یہ کہنا بھی نہیں ہو سکتا کہ کتنی نایاب ہے (1) خڈا کے بغیر ہر شے ناپاک ہے اے روحانی رہبر سنتہو تو کونسی چیز بھینٹ کی جائے (2) الہٰی رضا ہی الہٰی پرستش ہے الہٰی رضا ہی دل میں بساو یہی اسی بھینٹ کو وہ چاہتا ہے (3) سارا عالم الہٰی پرستش کرتا ہے مگر خودی پسندی کی کی ہوئی کوئی پرستش قبول نہیں ہوتی (4) جو شخص کلام کے ذریعے اے سنتہو اپنے آپ کو بدیون سے پاک بنا لیتا ہے اس کی پرسشت قبول ہوتی ہے (5) وہ انسان پاک زندگی گذارے ہو جاتے ہیں جنکا کلام سے محبت پیار اور لگن ہوجاتی ہے (6) بغیر الہٰی نام سچ و حقیقت کے دیگر کوئی چیز قابل پرستش نہیں۔ لوگ گمراہ ہیں

گُرمُکھِآپپچھانھےَسنّتہُرامنامِلِۄلائیِ॥੮॥
آپےنِرملُپوُجکراۓگُرسبدیِتھاءِپائیِ॥੯॥
پوُجاکرہِپرُبِدھِنہیِجانھہِدوُجےَبھاءِملُلائیِ॥੧੦॥
گُرمُکھِہوۄےَسُپوُجاجانھےَبھانھامنِۄسائیِ॥੧੧॥
بھانھےتےسبھِسُکھپاۄےَسنّتہُانّتےنامُسکھائیِ॥੧੨॥
اپنھاآپُنپچھانھہِسنّتہُکوُڑِکرہِۄڈِیائیِ॥੧੩॥
پاکھنّڈِکیِنےَجمُنہیِچھوڈےَلےَجاسیِپتِگۄائیِ॥੧੪॥
لفظی معنی:
آپ پچھانے ۔ خوئش اعمال کردار کی تحقیق و پہچان کرئے ۔ رام نام ۔ الہٰی نام۔ سچ و حقیقت (8) نرمل پوج ۔ پاک پرستش ۔ گر سبدی ۔ کلام مرشد سے ۔ تھائے پائی ۔ ٹھکانہ پاتا ہے ۔ قبول ہوتا ہے (9) انسان پرستش کرتا ہے ۔ بدھ نہیں جانیہہ ۔ طریقہ نہیں سمجھتا۔ دوبے بھائے ۔ دوسروں سے محبت ۔ مل لائی ۔ بدکاریوں کی ناپاکیزگی پیدا ہوتی ہے (10) بھانے ۔ رضا ۔ بھانا من وسائی ۔ رضا دلمیں بسا کر (11) انتے نام سکھائی ۔ بوقت اخرت یا آخر کار الہٰی نام سچ و حقیقت ہی مددگار اور ساتھی بنتا ہے ۔ (12) کوڑ۔ جھوٹی ۔ وڈیائی ۔ بلند عظمت و شہرت (13) پاکھنڈ دکھاوا۔ جسم ۔ الہٰی منصف۔ پت ۔ عزت۔
ترجمہ معہ تشریح:
مرید مرشد اپنےا عمال و کردار و زندگی کی تحقیقات کرتا ہے اور سچ حق و حقیقت سے پیا ر کرتا ہے دلمیں بساتا ہے (8) آپے نرمل پوجا مراد پاک پرستش یا عبادت و ریاضت کراتا ہے اور خود کلام مرشد میں محو ومجذوب ہونے کی وجہ سے قبول کرتا ہے اہمیت دیتا ہے (9 ) پوجا تو کرتے ہیں مگر طریقے کا علم نہیں دوسرےس ے محبت کی وجہ سے اپاک رہتے ہیں (10) مرید مرشد پرستش و عبادت کے طور طریقے جانتا ہے اور رضائے الہٰی رضا میں رہنے سے سارے آرام و آسائش حاصل ہوتی ہے اور دولت آخرت الہٰی دل میں بساتا ہے (11) اے روحانی رہبر ( سنتہو) جسے اپنے آپ کی خبر نہیں وہ اپنی جھوٹی شہرت کرتے ہیں (13) دکھاوا کرنے پر الہٰی منصف اُسے الذمہ نہیں گر دانتا بلکہ اپنی عزت گنواتا ہے ۔

جِنانّترِسبدُآپُپچھانھہِگتِمِتِتِنہیِپائیِ॥੧੫॥
ایہُمنوُیاسُنّنسمادھِلگاۄےَجوتیِجوتِمِلائیِ॥੧੬॥
سُنھِسُنھِگُرمُکھِنامُۄکھانھہِستسنّگتِمیلائیِ॥੧੭॥
گُرمُکھِگاۄےَآپُگۄاۄےَدرِساچےَسوبھاپائیِ॥੧੮॥
ساچیِبانھیِسچُۄکھانھےَسچِنامِلِۄلائیِ॥੧੯॥
بھےَبھنّجنُاتِپاپنِکھنّجنُمیراپ٘ربھُانّتِسکھائیِ॥੨੦॥
سبھُکِچھُآپےآپِۄرتےَنانکنامِۄڈِیائیِ॥੨੧॥੩॥੧੨॥
لفظی معنی:
جن کے دلمیں بستا ہے کلام موہ تحقیق کردار و اعمال اپنے کی کرتے ہیں ان ہی کو حقیقت کا اندازہ ہوتا ہے پتہ چلتا ہے (15) جب یہ دل ذہن نشین ہوجاتا ہے ۔ خیالات کی لہریں سکان ہوجاتی ہیں تو نور میں نور مل جاتا ہے (16) مرید مرشد کو سن سن کر عارفان پارسان و پاکدامناں کی صحبت و قربت میں سچ حق و حقیقت بیان کرتے ہیں (17) مرید مرشد الہٰی حمدوثناہ کرتا ہے دل سے خودی گنواتا ہے ۔ الہٰی در پر شہرت پاتا ہے (18) سچا کلام سچ کہتا ہے سچے صدیوی نام سچ و حقیقت سے پیار و لگن ہوتی ہے (19) خوف دور کرنے والا گناہ ختم کر نے والا میرا خدا آخر ساتھی و مددگار ہوجاتا ہے ۔ (20) سب کچھ خدا ہے سب میں خدا ہے اے نانک ۔ سچ و حق وحقیقت جو الہٰی نام سے عظمت و حشمت قدروقیمت دستیاب ہوتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੩॥
ہمکُچلکُچیِلاتِابھِمانیِمِلِسبدےمیَلُاُتاریِ॥੧॥
سنّتہُگُرمُکھِنامِنِستاریِ॥
سچانامُۄسِیاگھٹانّترِکرتےَآپِسۄاریِ॥੧॥رہاءُ॥
پارسپرسےپھِرِپارسُہوۓہرِجیِءُاپنھیِکِرپادھاریِ॥੨॥
اِکِبھیکھکرہِپھِرہِابھِمانیِتِنجوُئےَباجیِہاریِ॥੩॥
اِکِاندِنُبھگتِکرہِدِنُراتیِرامنامُاُرِدھاریِ॥੪॥
اندِنُراتےسہجےماتےسہجےہئُمےَماریِ॥੫॥
بھےَبِنُبھگتِنہوئیِکبہیِبھےَبھاءِبھگتِسۄاریِ॥੬॥
مائِیاموہُسبدِجلائِیاگِیانِتتِبیِچاریِ॥੭॥
آپےآپِکراۓکرتاآپےبکھسِبھنّڈاریِ॥੮॥
تِسکِیاگُنھاکاانّتُنپائِیاہءُگاۄاسبدِۄیِچاریِ॥੯॥
ہرِجیِءُجپیِہرِجیِءُسالاہیِۄِچہُآپُنِۄاریِ॥੧੦॥
لفظی معنی:
کچل ۔گمراہ ۔ غلط راستے پر چلنے والے ۔ کج روی ۔ کچیل ۔ گندے ۔ ناپاک ۔ ات ابھیمانی ۔ نہایت مغرور ۔ میل ۔ غلاظت (1) گورمکھ ۔ مرید مرشد ہونے سے ۔ نام نستاری ۔ سچ و حقیقت سے کامیابی ملتی ہے ۔ سچا نام۔ سدیوی سچ و حقیقت الہٰی نام کرتے ۔ کرتار ۔ خدا۔ سواری ۔ عزت یا زندگی درست کرتا ہے (1) رہاؤ۔ پارس۔ ایک خیالی پتھر جس کے چھونے سے لوہا سونا بن جاتا ہے ایسا خیال ہے (2) بھیکھ ۔ بھیس ۔ پہراوا۔ابھیمانی ۔ مغرور۔ جوئے بازی ہاری ۔ زندگی کا کھیل بیفائدہ گنواہ دیا (3) اندن ۔ ہر روز۔ اُر۔ دلمیں (4) بھے بن ۔ خوف کے بغیر ۔ بھے بھائے ۔ خوف و پریم پیار سے ۔ بھگت سواری ۔ زندگی ٹھیک اور درست ہوجاتی ہے (6) مائیا موہ سبد جلائیا ۔ دنیاوی دولت کی محبت سبق مرشد سے ختم کیاجاسکتی ہے ۔ گیان ۔علم ۔ سمجھ ۔ تت۔ نچوڑ۔ خلاصہ ۔ مول ۔ بنیاد۔ وچاری خیال کی سمجھی (7) گرتا ۔ کرتار ۔ خدا۔ بخس۔ عنایت و کرم سے ۔ بھنڈاری ۔ خزانے کا مالک بناتا ہے (8) گناہ ۔ اوصاف۔ انت ۔ آخر ۔ ہو ۔ میں۔ سبد وچاری ۔ کلام کو سمجھ کر (9) آپ ناری ۔ اپنت۔ آپا۔ خودی مٹا کر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبر ( سنتہو ) مرید مرشد ہوکر الہٰی نام سچ حق و حقیقت سے زندگی کامیاب ہوتی ہے ۔ جس کے دلمیں سچا صدیوی سچ اور سچا نام سچ حق و حقیقت بس جائے ۔ کرتار مراد خدا خود اس کی اپنت اور خویشتا خود درست کرتا ہے (1) رہاؤ۔ ہم دنیاوی لوگ عام طور پر گمراہ بد اخلاق بد چلن اور مغرور ہوتے ہیں۔ کلام و سبق مرشد اپنا کر ان برائیوں سے پاک ہو سکتے ہیں (1) پارس کے چھونے سے پارس ہوجاتا ہے ۔ جس پر خدا مہربان ہو ۔ مراد نیک انسانوں پارساؤں عارفوں پاکدامنوں کی صحبت و قربت جو اختیار کرتا ہے ۔ وہ پارسا ۔ عارف اور پاکدامن ہوجاتا ہے (2) بیشمار مذہی نمائش والا بھیس اور پہراوا بناتے ہیں اور اس بھیس کی وجہ سے مغرور ہیں انہوں نے اس جوئے کے کھیل میں زندگی تباہ کر ڈالی (3) ایک ایسے بھی ہیں روز و شب الہٰی نام سچ حق و حقیقت دل میں بسائے رکھتے ہیں (4) جو ہر روز روحانی سکون میں ذہن نشین رہتے ہیں قدرتی طور پر ان کی خودی مٹ جاتی ہے (5) الہٰی خوف و ادب دلمیں بسائے بغیر الہٰی عبادت بندگی و ریاضت نہیں ہو سکتی ۔ جو اپنے الہٰی خوف و آداب و پریم پیار بساتے ہیں وہ اپنی زندگی بہتر بنا لیتے ہیں (6) جنہوں نے علم و سمجھ کی حقیقت کو سمجھ لیا وہ دنیاوی دولت کی محبت کلام یا سبق مرشد سے ختم کر دیتے ہیں (7) خدا خود ہی کراتا ہے اور خود ہی بخشتا ہے خزانے (7) الہٰی اوصاف اتنے ہیں جنکا شمار نہیں ہو سکتا ۔ میں ان کو کلام سے سمجھتا ہوں (9) الہٰی صفت صلاح سے خودی مٹتی ہے (10)

نامُپدارتھُگُرتےپائِیااکھُٹسچےبھنّڈاریِ॥੧੧॥
اپنھِیابھگتانوآپےتُٹھااپنھیِکِرپاکرِکلدھاریِ॥੧੨॥
تِنساچےنامکیِسدابھُکھلاگیِگاۄنِسبدِۄیِچاریِ॥੧੩॥
جیِءُپِنّڈُسبھُکِچھُہےَتِسکاآکھنھُبِکھمُبیِچاریِ॥੧੪॥
سبدِلگےسیئیِجننِسترےبھئُجلُپارِاُتاریِ॥੧੫॥
بِنُہرِساچےکوپارِنپاۄےَبوُجھےَکوۄیِچاریِ॥੧੬॥
جودھُرِلِکھِیاسوئیِپائِیامِلِہرِسبدِسۄاریِ॥੧੭॥
کائِیاکنّچنُسبدےراتیِساچےَناءِپِیاریِ॥੧੮॥
کائِیاانّم٘رِتِرہیِبھرپوُرےپائیِئےَسبدِۄیِچاریِ॥੧੯॥
جوپ٘ربھُکھوجہِسیئیِپاۄہِہورِپھوُٹِموُۓاہنّکاریِ॥੨੦॥
لفظی معنی:
نام پدارتھ ۔ سچ و حقیقت الہٰی نام کی نعمت۔ اکھٹ۔ ناختم ہونے والے ۔ سچے صدیوی ۔ بھڈاری ۔ خزانے (11) تٹھا ۔ مہربان ۔ خوش۔ کل دھاری ۔ طاقت و قوت عنایت کرتا ہے (12) تن انہیں۔ ساچے نام۔ صدیوی نام۔ صدیوی سچ و حقیقت بھکھ ۔ خواہش۔ گاون سبد وچاری ۔ گاتے ہیں۔ کلام کو ۔ سمجھ کر (13) جیو پنڈ۔ زندگی اور جسم۔ تس کا ۔ اُسکا ۔ آکھن۔ وکھم وچاری ۔ جسکا سوچنا اور بیان کرنا دشوار ہے (14) نسترے ۔ کامیاب ۔ بھوجل پار اتاری ۔ زندگی کے خوفناک سمندر سے پار ہوئے (15) وچاری ۔ سمجھدار۔ پار ۔ کامیاب ۔ ہر ساچے ۔ سچے صدیوی خدا کے بغیر (16) دھر لکھیا۔ بارگاہ الہٰی کی طرف سے تحریر۔ سوار ۔ درست کی (17) کائیا ۔ کنچن۔ سونے کی مانند جسم۔ سبدے راتی ۔ کلام میں محو ہوکر ۔ ساچے نائے پیاری ۔ سچے صدیوی الہٰی نام سچ و حقیقت سے پیاری ہوجاتی ہے (18) کائیا انمرت رہی بھر پورے ۔ یہ جسم مکمل طور پر آب حیات سے بھرا ہوا ہے ۔ پاپیئے سبد وچاری جو کلام کو سمجھنے سے پائیا جاتا ہے (19) جو پربھ کھوجیہہ ۔ جسے ہے جستجو خدا کی ۔ سوئی پاویہہ ۔ ملتا ہے اسے ۔ پھوٹ ۔ موئےا ہنکاری ۔ غرور میں روحانی موت ووفات پاگئے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام سچ و حقیقت کی نعمت مرشد سے ملتی ہے جس کے خزانوں میں کمی واقع نہیں ہوتی (11) خدا اپنے پریمیوں پر آپ خوش ہو کر مہربان ہوتا ہے اور انہیں طاقت دیتا ہے (12) یہ جند جان سبھ خدا کی ہے مگر کہنا اور سمجھنا دشوار ہے (13) انہیں سچے نام سچ و حقیقت کی ہمیشہ بھوک و خواہش رہتی ہے ۔ کلام کو سمجھ کر حمدوثناہ کرتے ہیں (13) کلام میں جو دھیان لگاتے ہیں دنیاوی زندگی کے خوفناک سمندر پر عبور وہ پاتے ہیں (15) کوئی سمجھد ار ہی اس حقیقت کو سمجھتا ہے کہ صدیوی سچے نام سچ و حقیقت کے بغیر سچے خدا کے بغیر کامیاب نہیں بنا سکتا ۔ (16) جو عدالت عالیہ الہٰی کی طرف سے ہوتا ہے تحریر وہی ملتا ہے اور الہٰی کلام سے محو ومتاثر جسم سونے جیسا ہو جاتا ہے اور سچے نام سچ و حقیقت سے پیارا ہوجاتا ہے (18) یہ جسم آبحیات سے بھرا ہوا ہے مگر کلام کو سمجھنے سے حاصل ہوتا ہے (19) جسے ہے جستجو خدا کی پاتا ہے وہی دوسرے غرور اور تکبر میں گھل گھل کر روحانی موت مرتے ہیں۔

بادیِبِنسہِسیۄکسیۄہِگُرکےَہیتِپِیاریِ॥੨੧॥
سوجوگیِتتُگِیانُبیِچارےہئُمےَت٘رِسناماریِ॥੨੨॥
ستِگُرُداتاتِنےَپچھاتاجِسنوک٘رِپاتُماریِ॥੨॥੩॥
ستِگُرُنسیۄہِمائِیالاگےڈوُبِموُۓاہنّکاریِ॥੨੪॥
جِچرُانّدرِساسُتِچرُسیۄاکیِچےَجاءِمِلیِئےَراممُراریِ॥੨੫॥
اندِنُجاگترہےَدِنُراتیِاپنےپ٘رِءپ٘ریِتِپِیاریِ॥੨੬॥
تنُمنُۄاریِۄارِگھُمائیِاپنےگُرۄِٹہُبلِہاریِ॥੨੭॥
مائِیاموہُبِنسِجائِگااُبرےسبدِۄیِچاریِ॥੨੮॥
آپِجگاۓسیئیِجاگےگُرکےَسبدِۄیِچاریِ॥੨੯॥
نانکسیئیِموُۓجِنامُنچیتہِبھگتجیِۄےۄیِچاریِ॥੩੦॥੪॥੧੩॥
لفظی معنی:
بادی ۔ جھگڑا لو ۔ ونسیہہ ۔ مٹ جاتا ہے ۔ گر کے ہیت پیاری مرشد کے پریم پیار سے ۔ سیوک سیویہہ ۔ خدمتگار خدمت کرتے ہیں (21) سوجوگی ۔ وہ جوگی ۔ تُت ۔ اصلیت ۔ حقیقت ۔ گیان ۔ علم ۔ روحانیت کی سمجھ ۔ بیچارے ۔ وچار کرتا ہے ۔ سوچتا ہے ۔ ہونمے ترسنا۔ خودی اور خواہش (22) داتا۔ سخی ۔ سخاوت کرنے والا ۔ تنے ۔ اُسی نے ۔ کر پاتُماری ۔ جس پر تیری مہربانی ہے (23) اہنکاری ۔ مغرور ۔ مائیا لاگے ۔ دولت سے محبت۔ (24) جچر۔ جتنی دیر ۔ تچر۔ اُتنی ۔ دیر ۔ کیچے ۔ کرؤ (25) اُندن ۔ ہر روز۔ جاگت۔ بیدار ۔ پریہ ۔ پریتم ۔ پیارے ۔ پری پیاری ۔ پیاری پریت کی خاطر (26) تَن ۔ن ۔ دل وجان ۔ داری وار گھمائی ۔ صدقے جاؤ (27) اُبھرے ۔ بچے ۔ سبد۔ وچاری۔ کلام کو سمجھ کر (28) جگائے ۔ بیداری ۔ ہوشیار کرئے (29) سیئی موئے بے نام ۔ نہ چیتہہ۔ اگر الہٰی نام سچ و حقیقت دلمیں نہ بسائے وہ روحانی واخلاقی طور پر فوت ہوجاتے ہیں۔ بھگت جیویہہ وچاری ۔ الہٰی پریمی پیارے ۔ سوچ سمجھ عقل و ہوش روحانی واخلاقی طور پر زندگی بسر کرتے ہیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
بحث مباحثے کرنے والے روحانی واخلاقی طور پر فوت ہوجاتے ہیں مگر خدمتگار خدمت کرتے ہیں مرشد سے ملے پریم پیار کی وجہ سے (21) وہی انسان جوگی یا خدا رسیدہ ہے جو اصلیت کی پہچان کرکے خودی اور خواہشات مٹالیتا ہے (22) سچے سخی مرشد کی پہچان وہی کرتا ہے جس پر اے خدا تیری مہربانی ہے (23) جو نہ سچے مرشد کی خدمت کرتا ہے اور دنیاوی دولت سے محبت ہے ایسا مغرور روحانی واخلاقی طور پر ختم ہوجاتا ہے (24) جتنی دیر جسم میں سانس جاری ہیں خدمت خدا کیجیئے اس سے وصل خدا نصیب ہوتا ہے (25) اپنے پیارے پریتم کے پیار سے انسان ہر وقت بیدار و ہوشیار رہتا ہے ۔ روز و شب (26) میں اپنے مرشد پر صدقے ہوں دل وجان قربان کرتا ہوں (27) اے انسان دنیاوی دولت کی محبت مٹ جائیگی کلام کی محبت میں ہی بچاؤ ہے اسے سمجھنے سے (28) وہی ہوتے ہیں بیدار غفلت سے خدا جنہیں خود جگاتا ہے ۔سمجھدار ہوجاتے ہیں کلام مرشد کی برکت و عنایتس ے (29) اے نانک جن کےد ل میں نہیں یاد سچ و حقیقت کی وہ روحانی واخلاقی موت مرتے ہیں الہٰی عاشقوں کو ملتی ہے روحانی زندگی الہٰی اوصاف کو سمجھنے سے ۔

رامکلیِمہلا੩॥
نامُکھجاناگُرتےپائِیات٘رِپتِرہےآگھائیِ॥੧॥
سنّتہُگُرمُکھِمُکتِگتِپائیِ॥
ایکُنامُۄسِیاگھٹانّترِپوُرےکیِۄڈِیائیِ॥੧॥رہاءُ॥
آپےکرتاآپےبھُگتادیدارِجکُسبائیِ॥੨॥
جوکِچھُکرنھاسوکرِرہِیااۄرُنکرنھاجائیِ॥੩॥
آپےساجےس٘رِسٹِاُپاۓسِرِسِرِدھنّدھےَلائیِ॥੪॥
تِسہِسریۄہُتاسُکھُپاۄہُستِگُرِمیلِمِلائیِ॥੫॥
آپنھاآپُآپِاُپاۓالکھُنلکھنھاجائیِ॥੬॥
آپےمارِجیِۄالےآپےتِسنوتِلُنتمائیِ॥੭॥
لفظی معنی:
ترپت رہے اگھائی ۔ پیاس اور بھوک دور ہوئی کوئی خواہش باقی نہیں رہی (1) مکت ۔ برائیوں سے نجات ۔ گت ۔ بلند روحانی حالت۔ گھٹ انتر۔ دلمیں ۔ وڈیائی ۔ عظمت ۔ بزرگی (1) رہاؤ۔ کرتا۔ کرتار ۔ بھگنا ۔ تصرف میں لانے والا۔ استعمال کرنے والا۔ رزق ۔ روٹی روزی ۔ سبائی ۔ سبھ کو (2) اور ۔ دوسرا ۔ کرتا جائی ۔ نہیں کر سکتا (3) ساجے پیدا کرتا ہے ۔ سر شٹ اُپائے ۔ دنیا یا عالم پیدا کیا ہے ۔ سر سر ۔ ہر ایک کو ۔ دھندے ۔ کام کرت۔ لائی ۔ لگائی ہے (4) تسیہہ۔ اُسے ۔س ریو ہو ۔ خدمت کرؤ۔ میل ملائی۔ ملاپ کراتا ہے (5) آپ ۔ آپا ۔ خوئشتا ۔ الکھ ۔ سمجھ سے باہر (6) ۔ تل ۔ رتی بھر ۔ تل جتنی ۔ تمائی ۔ طمع ۔ لالچ (7)
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا رسیدہ عاشق الہٰی مرشد کے وسیلے سے نجات یافتہ حالات حاصل وہتے ہیں واحد نام خدا کا اس کے دل میں بس جاتا ہے یہی کامل مرشد کی عظمت ہے (1) رہاؤ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت کا خزانہ مرشد سے حاصل ہوا جس سے دنیاوی دولت کی بھوک پیاس جاتی رہی اور سیر ہوا (1) خود ہی ساری قائنات و خلقت کو پیدا کرنے والا ہے ۔ اور خو دہی رازق سے سب کا خود ہی تصرف میں لاتا ہے (2) اُس کی جو کچھ کرنے کی خواہش ہے کر رہا ہے اُس کے بر عکس کسی کی کچھ کرنے کی مجال اور توفیق نہیں (3) خود ہی منصوبہ ساز اور عالم کو پیدا کرنے والا ہے اور ہر ایک کو کام و غرض بخشش کیا ہے (4) خدا کی خدمت کرنے سے ہی آرام و آسائش ملتا ہے ۔ مرشد ملاپ کراتا ہے (5) خود ہی خدا خود کو ظہور میں لاتا ہے وہ اعداد و شمارو حساب کتاب سے بعید ہے ۔ اور سمجھ و دانش سے باہر ہےا ور بیان نہیں ہو سکتا (6) وہ مراد خود خدا روحانی موت دیتا ہے اُسے کسی سے کوئی لالچ نہیں ہے ۔ (7)

اِکِداتےاِکِمنّگتےکیِتےآپےبھگتِکرائیِ॥੮॥
سےۄڈبھاگیِجِنیِایکوجاتاسچےرہےسمائیِ॥੯॥
آپِسروُپُسِیانھاآپےکیِمتِکہنھُنجائیِ॥੧੦॥
آپےدُکھُسُکھُپاۓانّترِآپےبھرمِبھُلائیِ॥੧੧॥
ۄڈاداتاگُرمُکھِجاتانِگُریِانّدھپھِرےَلوکائیِ॥੧੨॥
جِنیِچاکھِیاتِناسادُآئِیاستِگُرِبوُجھبُجھائیِ॥੧੩॥
اِکناناۄہُآپِبھُلاۓاِکناگُرمُکھِدےءِبُجھائیِ॥੧੪॥
لفظی معنی:
داتے ۔ دینے والے ۔ سخی ۔ منگتے ۔ بھکاری ۔ بھگت ۔ پریمی (8) وڈبھاگی ۔ بلند قسمت ۔ ایکو جاتا ۔ واحد خدا کی پہچان کی ۔ سچے رہے سمائی ۔ صدیوی سچے خدا میں محو و مجذوب رہے (9) سرو پ ۔ شکل و صورت ۔ خوبصورت ۔ سیانا۔ دانشمند۔ قیمت ۔ قدر (10) بھرم۔ بھٹکن گبھراہٹ ۔ بھلائی ۔ گمراہ (11) گورمکھ جاتا ۔ مرید مرشد پہچان کی ۔ نگری ۔ بے مرشد۔ اند ۔ بغیر دانشمند ۔ لوکائی ۔ دنیا کے لوگ (12) ساد۔ لطف۔ بوجھ بجھائی ۔ سمجھائیا (13) ناوہو۔ نام مراد سچ و حقیقت سے ۔ بھلائے ۔ گمراہ کئے ۔ گورمکھ دئے بجھائی ۔ مرشد کی وساطت سے ۔ سمجھاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا نے ایک سخی پیدا کئے ہیں اور ایک بھکاری نادار بنائے ہیں اور وہ ا ز خود ہی اپنا پیار کراتا ہے (8) بلند قسمت سے جنہوں نے واحد خدا کو پہچان لیا وہ صدیوی سچے خدا میں محو مجذوب رہے (9) خدا خود سب سے خوبصورت ہے دانشمند ہے ۔ جس کی قیمت بیا ن سے باہر (10) خدا خود ہی عذاب و آسائش دیتا ہے اور خود ہی گمراہ کرتا ہے (11) اُس بھاری سخی کی مرشد پہچان کراتا ہے ورنہ بغیر مرشد بے سمجھی میں گمراہ ہوکر بھٹکتے پھرتے ہیں (12) جنہوں نے الہٰی لطف لیاانہوں نے لذت محسوس کی سچے مرشد سے سمجھائیا (13) ایک کو خدا نے اپنے نام سچ و حقیقت سے خود ہی گمراہ کر رکھا ہے اور ایک کو مرید مرشد بنا کر سمجھ عنایت کرتا ہے ۔ (12)

سداسداسالاہِہُسنّتہُتِسدیِۄڈیِۄڈِیائیِ॥੧੫॥
تِسُبِنُاۄرُنکوئیِراجاکرِتپاۄسُبنھتبنھائیِ॥੧੬॥
نِیاءُتِسےَکاہےَسدساچاۄِرلےہُکمُمنائیِ॥੧੭॥
تِسنوپ٘رانھیِسدادھِیاۄہُجِنِگُرمُکھِبنھتبنھائیِ॥੧੮॥
ستِگُربھیٹےَسوجنُسیِجھےَجِسُہِردےَنامُۄسائیِ॥੧੯॥
سچاآپِسداہےَساچابانھیِسبدِسُنھائیِ॥੨੦॥
نانکسُنھِۄیکھِرہِیاۄِسمادُمیراپ٘ربھُرۄِیاس٘ربتھائیِ॥੨੧॥੫॥੧੪॥
لفظی معنی:
وڈی وڈیائی ۔ بھاری عظمت و شہرت۔ راجہ ۔ حکمران ۔ تپادس۔ انصاف ۔ بنت ۔ منصوبہ (16) نیاوں۔ انصاف ۔و رے ۔ کسی کو ہی (17) پرانی ۔ انسان جن گورمکھ بنت بنائی ۔ جسنے مرش کے ذریعے طریقہ یا منصوبہ تیار کیا ہے (18) ستگر بھیٹے ۔ سچے مرشد سے ملاپ کرنے ۔ سبھے ۔ سمجھے ۔ کامیاب ۔ ہردے ۔ دلمیں (19) سچا۔ صدیوی سچا ۔ بانی ۔ بول۔ کلام سنائی۔ سناتا ہے (20) وسماد۔ حیران کرنے والا۔ پربھ ۔ رویا سرب تھائی۔ خدا سب جگہ بستا ہے (21)
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبر و ہمیشہ حمد ثناہ کرو خدا کی وہ بلند عظمت والا ہے اس کے بغیر نہیں کوئی حکمران جس نے طریقہ و منصوبہ انصاف ایجاد کیا ہو (16) اُسکا انصاف ہے صدیوی سچا کسی کو حکم کی تعمیل کے لئے حکم نہیں کرتا ہے (17) اے انسانوں ہمیشہ دھیان لگاؤ اُس میں جس نے مرید مرشد ہونے کا طریقہ ایجاد کیا ہے (18) جسکا ملاپ مرشد سے ہوتا ہے وہ دل میں الہٰی نام سچ و حقیقت بساتا ہے (19) کلام سے سناتا ہے کہ سچا ہے صدیوی ہے سچا خدا۔ اے نانک۔ سُنکے اور دیکھ کر ہوں حَیران کہ میرا خُدا ہرجائی ہے۔

رامکلیِمہلا੫اسٹپدیِیا
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
کِنہیِکیِیاپرۄِرتِپسارا॥
کِنہیِکیِیاپوُجابِستھارا॥
کِنہیِنِۄلبھُئِئنّگمسادھے॥
موہِدیِنہرِہرِآرادھے॥੧॥
تیرابھروساپِیارے॥
آننجاناۄیسا॥੧॥رہاءُ॥
کِنہیِگ٘رِہُتجِۄنھکھنّڈِپائِیا॥
کِنہیِمونِائُدھوُتُسدائِیا॥
کوئیِکہتءُاننّنِبھگئُتیِ॥
موہِدیِنہرِہرِاوٹلیِتیِ॥੨॥
کِنہیِکہِیاہءُتیِرتھۄاسیِ॥
کوئیِانّنُتجِبھئِیااُداسیِ॥
کِنہیِبھۄنُسبھدھرتیِکرِیا॥
موہِدیِنہرِہرِدرِپرِیا॥੩॥
کِنہیِکہِیامےَکُلہِۄڈِیائیِ॥
کِنہیِکہِیاباہبہُبھائیِ॥
کوئیِکہےَمےَدھنہِپسارا॥
موہِدیِنہرِہرِآدھارا॥੪॥
لفظی معنی:
کنہی ۔ کسی نے ۔ پرورت ۔ خانہ داری ۔ گھریلو زندگی ۔ پوجا بستھار۔ پرستش کا پھیلاؤ۔ پسار ۔ پھیلاؤ۔ نول۔ بھونگم سادھے ۔ کسی نے جوگی کے جسمانی پاکیزگی کے طریقے اپنائے ۔ دین غریب نے ۔ ہر ہر ارادھے ۔ خدا یا کیا (1) بھروسا۔ اعتماد۔ اعتقاد ۔ یقین ۔ آن۔ ہور۔ دوسرا۔ جانا۔ سمجھتا ہوں۔ ویسا۔ بھیس۔ پہراوا۔ (1) رہاؤ۔ گر یہہ تج ۔ گھر چھوڑ کر ۔ بن کھنڈ ۔جنگل میں گوشہ نشینی ۔ مون ۔ خاموشی ۔ اودہوت ۔ تیاگی ۔ طارق الدنیا۔ انن۔ وحدت پرست۔ بگوتی ۔ الہٰی پریمی ۔ اوٹ۔ اسرا (2) تیرتھ واسی ۔ زیارت گاہ کا باشندہ ۔ ان تج ۔ اناج چھوڑ کر ۔ اداسی ۔ طارق ۔ دنیا سے بیزار ۔ بھون۔ یا ترا ۔ سفر۔ ہر در۔ الہٰی در پر (3) ( چتر) کلیہہ ۔ خاندان ۔ باہ بہو بھائی۔ بہت سے بھائی میرے بازو ہیں۔ دھنیہہ پسار۔ دولت کا پھیلاؤ ۔ آدھار۔ آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے پیارے خدا مجھے تجھ پر اعتماد ہے اور تجھ میں ہی اعتقاد ہے کوئی بھیس یا بھیکھ بنانا نہیں جانتا (1) رہاؤ۔ کسی نے دنیاداری کا پھیلاؤ کر رکھا ہے کسی نے پرستش کا پھیلاؤ کیا ہو۔ آہے کوئی نیولی اور کنڈلتی ناڑی کی صفائی کا ناتک رچائیا ہوا ہے ۔ مگر میرا غریب کا الہٰی یادوریاض ہے (1) کوئی گھر چھور کر جنگل میں گوشہ نشین ہوا۔ کسی نے خامو ش اختیار کرکے طارق الدنیا کہلائیا۔ کسی نے خدا کے سوا کسی سے کوئی واسطہ اور رشتہ نہ ہونے والا کہلائیا ۔ مگر مجھ غریب نے خدا کا آسرا لیا ہے (2) کسی نے کہا کہ زیارت گاہ کا باشندہ ہوں کسی نے اناج چھوڑ کر دنیا سے بیزار ہو بیٹھا ہے ۔ کوئی سر زمین کا چکر لگاتا ہے ۔ مگر میں غریب الہٰی در پر آکر پڑ گیا ہوں (3) کوئی کہتا ہے اونچے خاندان سے ہوں کوئی کہتا ہے میں بہت سے بھائیوں واہوں ہوں جو میرے بازو ہیں کوئی کہتا ہے کہ میں دولتمند ہوں مگر مجھ غریب کا خدا ہی آسرا ہے ۔

کِنہیِگھوُگھرنِرتِکرائیِ॥
کِنہوُۄرتنیممالاپائیِ॥
کِنہیِتِلکُگوپیِچنّدنلائِیا॥
موہِدیِنہرِہرِہرِدھِیائِیا॥੫॥
کِنہیِسِدھبہُچیٹکلاۓ॥
کِنہیِبھیکھبہُتھاٹبناۓ॥
کِنہیِتنّتمنّتبہُکھیۄا॥
موہِدیِنہرِہرِہرِسیۄا॥੬॥
کوئیِچتُرُکہاۄےَپنّڈِت॥
کوکھٹُکرمسہِتسِءُمنّڈِت॥
کوئیِکرےَآچارسُکرنھیِ॥
موہِدیِنہرِہرِہرِسرنھیِ॥੭॥
سگلےکرمدھرمجُگسودھے॥
بِنُناۄےَاِہُمنُنپ٘ربودھے॥
کہُنانکجءُسادھسنّگُپائِیا॥
بوُجھیِت٘رِسنامہاسیِتلائِیا॥੮॥੧॥
لفظی معنی:
گھو گھونرت ۔ گھنگرو والا ناچ۔ درت ۔ پرہیز گاری ۔ مالا ۔ تسبیح۔ گوپی چندن۔ دوار کا نزدک ایک تالاب کی پیلی مٹی کا ٹکا لگانا (5) سدھ بہو چیٹک ۔ سدھ ۔ جنہوں نے لوگ کے طریقوں کی مہارت حاصل کر لی ہے ۔ چیٹک ۔ معجزوں کے کھیل ۔ بھیکھ ۔ بھیس ۔ پہراوے ۔ تھاٹ۔ بناوٹ۔ تنت ۔ منت ۔ جادو۔ ٹونے ۔ تعویذ۔ گھنڈ ے وغیرہ ( کھیوٹ) کھیوا۔ صلاحی ۔ سیوا۔ خدمت (6) چتر ۔ چالاک ۔ دانشمند۔ پنڈت۔ ماہر ۔علم و علوم ۔ کھٹ کرم ۔ شاشتروں کے بتائے ہوئے چھ اعمال ۔ منڈت ( پرستش ) آچار۔ شاشتروں کے بتائے ہوئے اعمال ۔ سکرنی ۔ نیک اعمال (7) سگللے سارے ۔ کرم دھرم۔ مذہبی ۔ اعمال ۔ جگ۔ زمانے ۔ سودھے ۔ آزمائش کی ۔ آزمائے ۔ پر بودھے ۔ بیدار ۔ ہوشیار۔ سمجھدار ۔ سادھ سنگ۔ پارساؤں۔ عارفوں نیکدامنوں کا ساتھ وصحبت ۔ بوجھی ترسنا۔ خواہش۔ مٹی ۔ پیاس دور ہوئی ۔ سیتلائیا۔ ٹھنڈک محسوس ہوئی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کوئی دیو تاؤں کے آگے ناچ کرتا ہے گھنگر باندھ کر ۔ کسی نے گلے میں تسبیح پائی ہوئی ہے ۔ کوئی فاقہ رکھنے کا پابند ہے ۔ کسی نے پیلی مٹی کا پیشانی پر تلک لگائیا ہوا ہے ۔ مگر مجھ غریب کو خدا کا ہی آسرا ہے (5) کسی نے سدھوں کے کراماتی معجزے دکھانے شروع کر رکھے ہیں کسی نے سادہوں اور فقیروں کے بھیس بنائے ہوئے ہیں ۔ کسینے جادو ٹو نے تعویز اور گنڈوں کی دکانیں چلائی ہوئی ہیں۔ مگر میں تو صرف خدا کی یادوریاض کرتا ہوں (6) کوئی اپنے آپ کو دانشمند پنڈت عالم فاضل کہلاتا ہے کوئی شاشتروں کے بتائے ہوئے چھ اعمال سے بلند ترین اعمال سمجھ کر مذہبی اعمال سے اپنے آپ کو آراستہ کرتا ہے ۔ مگر میں غریب تو صرف خدا کی پناہ اور زیر سایہ رہتا ہوں (7) اے بھائیوں ہر دور زماں کے سارے اعمال و فرائض مذہبی کی تحقیق کی ہے الہٰی نام سچ حق و حقیقت کے بغیر یہ من بیداری نہیں ہوتا۔ اے نانک بتادے جب سے صحبت و قربت پاکدامن حاصل ہوئی ہے ۔ خواہشات کی پیاس بجھ گئی ہے اور دل کو سکن ملی ہے دل کو تسکین ملی ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
اِسُپانیِتےجِنِتوُگھرِیا॥
ماٹیِکالےدیہُراکرِیا॥
اُکتِجوتِلےَسُرتِپریِکھِیا॥
ماتگربھمہِجِنِتوُراکھِیا॥੧॥
راکھنہارُسم٘ہارِجنا॥
سگلےچھوڈِبیِچارمنا॥੧॥رہاءُ॥
جِنِدیِۓتُدھُباپمہتاریِ॥
جِنِدیِۓبھ٘راتپُتہاریِ॥
جِنِدیِۓتُدھُبنِتاارُمیِتا॥
تِسُٹھاکُرکءُرکھِلیہُچیِتا॥੨॥
جِنِدیِیاتُدھُپۄنُامولا॥
جِنِدیِیاتُدھُنیِرُنِرمولا॥
جِنِدیِیاتُدھُپاۄکُبلنا॥
تِسُٹھاکُرکیِرہُمنسرنا॥੩॥
چھتیِہانّم٘رِتجِنِبھوجندیِۓ॥
انّترِتھانٹھہراۄنکءُکیِۓ॥
بسُدھادیِئوبرتنِبلنا॥
تِسُٹھاکُرکےچِتِرکھُچرنا॥੪॥
لفظی معنی:
اس پانی ۔ مراد تخم انسانی ۔ گھر یا ۔ گھڑییا ۔ پیدا کیا۔ دیہہ ۔ مندر جسم۔ اکت جوت۔ عقل و دلیل ۔ سرت پر لکھیا۔ پہچاننے کی ہوش و عقل ۔ مات گربھ۔ ماں کے پیٹ میں ۔ راکھیا۔ حفاظت کی (1) سمہار ۔ یادرکھ ۔ سنبھال ۔ رکھنہار۔ حفاظت کرنے والے ۔ محافظ ۔ جنا۔ اے انسان۔ سگلے ۔ سارے ۔ وچار۔ خیالات۔ (1) رہاؤ۔ باپ مہتاری ۔ ماتا ۔ پتا ۔ والدین ۔ بھرات پت ہاری۔ جسنے بھائی بیٹے اور خدمتگار عنایت کئے ۔ بنتا۔ عورت۔ زوجہ ۔ بیوی ۔ میتا۔ دوست۔ چیتا۔ دلمیں (2) پون امولا۔ بیش قیمت۔ ہوا۔ نیر۔ پانی ۔ نرمولا۔ جس کی قیمت کا تعین نہ ہوسکے ۔ پاوک بلنا۔ ایندھن اور آگ ۔ سرنا۔ پناہ ۔ زیر سایہ (3) چھتی انمرت بھوجن ۔ چھتیس قسم کے آب حیات کی ماند لذیز کھاتے ۔ انتر تھا ن ٹھہراون کو کئے ۔ جسم میں کھناے رکھنے کے لئے جگہ بنائی ۔ بسدھا۔ زمین۔ برتن بلنا۔ اور برتنے کا سامان ۔ ٹھاکر ۔ مالک ۔ چت رکھ چرنا۔ اپنا دل اس کے پاؤں میں رکھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان اپنے محافظ کو دلمیں بسا دورے تمام خیال دل سے بھلا (1) رہاؤ۔ اس تخم سے جس نے تجھے پیدا کیا ہے اور مٹی سے تیرا جسمانی مندر تیار کیا ہے ۔ جس خدا نے عقل و شعور اور تمیز تیرے اندر پیدا کی ہے اور ماں کے پیٹ میں تیری حفاظت کی ہے (1) جس نے تجھے ماں با پ کی بخش کی ہے ۔ جس نے تجھے بھائی بیٹے اور خدمتگار بخشے ہیں۔ جس نے تجھے دوست اور بیوی عنایت کی ہے ۔ اپسے ہمیشہ اپنے دل میں بسا (2) جس نے اے انسان نایاب ہوا عنایت کی ہے جو مول نہیں مل سکتی اور پانی دیا ہے ۔ آگ اور ایندھن دیا ہے اے دل تو اس کے زیر سایہ رہ (3) جس خدا نے اے انسان تجھے آب حیات جیسے لذیر کھانے بیشمار قسموں کے مہیا کئے ہیں جن کے ہضم کرنے کے لئے تیرے جسم میں معدہ وغیرہ اعضا بنائے ہیں زمین رہنے کے لئے دی ہے اور برتنے کا سامان عنایت کیا ہے اس ایسے مالک کو دلمیں بسا۔

پیکھنکءُنیت٘رسُننکءُکرنا॥
ہستکماۄنباسنرسنا॥
چرنچلنکءُسِرُکیِنومیرا॥
منتِسُٹھاکُرکےپوُجہُپیَرا॥੫॥
اپۄِت٘رپۄِت٘رُجِنِتوُکرِیا॥
سگلجونِمہِتوُسِرِدھرِیا॥
ابتوُسیِجھُبھاۄےَنہیِسیِجھےَ॥
کارجُسۄرےَمنپ٘ربھُدھِیائیِجےَ॥੬॥
ایِہااوُہاایکےَاوہیِ॥
جتکتدیکھیِئےَتتتتتوہیِ॥
تِسُسیۄتمنِآلسُکرےَ॥
جِسُۄِسرِئےَاِکنِمکھنسرےَ॥੭॥
ہماپرادھیِنِرگُنیِیارے॥
ناکِچھُسیۄاناکرمارے॥
گُرُبوہِتھُۄڈبھاگیِمِلِیا॥
نانکداسسنّگِپاتھرترِیا॥੮॥੨॥
لفظی معنی:
پیکھن کؤ۔ دیکھنے کے لئے ۔ نیتر۔ آنکھیں۔ سنن۔ سننے کے لئے کرنا۔ کان ۔ ہست۔ ہاتھ ۔ کماون۔ کام کرنے کے لئے ۔ بان۔ ناک ۔ رسنا۔ زبان۔ چرن۔ پاؤں۔ چلن کو ۔ چلنے کے لئے ۔ سر کینو میرا۔ سر کو اونچا بنائیا (5) اپوتر۔ ناپاک۔ پوتر ۔ پاک ۔ سردھریا۔ بلند حیثیت کیا مراد شرف المخلوقات بنائیا۔ سیجھ ۔ سمجھ ۔ کامیاب بنا۔ بھاوے چاہے ۔ نا سمجھ ۔ سمجھ ۔ ناکامیاب ۔ بنا ۔ کارج ۔ مقصد۔ پربھ دیھئتجے ۔ خدا میں دھیان لگانیسے (6) ایہا ۔ اہا۔ ہر دو عالموں میں ۔ا یکے واہی ہے وہی واحد خدا ۔ جت کت ۔ جہاں کہاں۔ تت تت۔ و ہیں وہیں۔ تو ہی ۔ وہی ۔ آتس۔ ستی ۔ غفلت۔ نمکھ ۔ آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے ۔ سرے ۔ نبھاہ ۔ گذار (7) اپرادھی ۔ گناہگار ۔ نرگنیارے ۔ بے اوصاف۔ سیوا۔ خدمت۔ کرمارے ۔ نہ نیک اعمال۔ لوہتھ ۔ جہاز۔ داس سنگ۔ خدمتگار کے ساتھ ۔ پاتھر۔ سنگدل ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسا خدا نے دیکھنے کے لئے آنکھیں سننے کے لئے کان کام کے لئے ہاتھ ناک اور زبان دی ہے ۔ چلنے کے لئے پاؤں اور سب سے بلند اعضے سر سوچنے سمجھنے کے لئے دیا ہے ۔ اے دل اس آقا کے پاؤں کی پرستش کر (5) جس نے تجھے ناپاک سے پاک بنائیا ہے ۔ اور تمام جانداروں پر سبقت دیکر شرف المخلوقات پیدا کیا ہے ۔ اب تو زندگی کامیاب بنایا نہ بنا ۔ مگر کامیابی دل کے خدا میں دھیان دینے یا ٹکانے میں ہے (6) یہاں وہاں مراد ہر دو عالموں میں ہے وہی خدا ۔ جدھر نظر جاتی ہے ہوتا ہے دیدار میئسر ۔ اس کی خدمت میں دل ستی اور غفلت کرتا ہے جس کے بھلانے سے آنکھ جھپکنے کی دیرک ے لئے ہوتا نہیں نبھاہ یا گذار (7) ہم گناہگار ہیں بے اوساف ہیں نہ کوئی خدمت کرتے ہیں نہ نیک اعمال ہیں اے خادم نانک۔ جسے بلند قسمت سے مرشد جو ایک جہاز کی مانند ہے ملیگیا ۔ اس کی صحبت و قربت میں سنگدل انسان کی بھی زندگی کامیابی ہوگئی ۔

رامکلیِمہلا੫॥
کاہوُبِہاۄےَرنّگرسروُپ॥
کاہوُبِہاۄےَماءِباپپوُت॥
کاہوُبِہاۄےَراجمِلکھۄاپارا॥
سنّتبِہاۄےَہرِنامادھارا॥੧॥
رچناساچُبنیِ॥
سبھکاایکُدھنیِ॥੧॥رہاءُ॥
کاہوُبِہاۄےَبیدارُبادِ॥
کاہوُبِہاۄےَرسناسادِ॥
کاہوُبِہاۄےَلپٹِسنّگِناریِ॥
سنّترچےکیۄلناممُراریِ॥੨॥
کاہوُبِہاۄےَکھیلتجوُیا॥
کاہوُبِہاۄےَاملیِہوُیا॥
کاہوُبِہاۄےَپردربچد਼راۓ॥
ہرِجنبِہاۄےَنامدھِیاۓ॥੩॥
کاہوُبِہاۄےَجوگتپپوُجا॥
کاہوُروگسوگبھرمیِجا॥
کاہوُپۄندھارجاتبِہاۓ॥
سنّتبِہاۄےَکیِرتنُگاۓ॥੪॥
لفظی معنی:
کاہو بہاوے ۔ کسی کی گذرتی ہے ۔ رس روپ ۔ خوبصورتی کے لطف اُٹھانے میں۔ راج ۔ حکمرانی ۔ ملکھ ۔ جائیداد ۔ واپارا۔ بیوپار ۔ تجارت ۔ سنت پہاوے ہر نام ادھار۔ روحانی رہبر عارفوں کی الہٰی نام سچ و حقیقت میں گذرتی ہے انہیں اسی کا آسرا ہے (1) ساچ ۔ صدیوی سچ سچا خدا۔ رچنا۔ پیدا کیا ہوا عالم ۔ بنی پیدا کی ہوئی (1) رہاؤ۔ وید اربا د۔ مذہبی کتابوں اور بحث مباحثے میں۔ رسنا ساد۔ زبان کے لفطوں میں۔ لپٹ سنگ ۔ ناری ۔ عورت کی محبت میں۔ نام مراری خدا کے نام میں (2) کھیلت جوآ۔ جوئے بازی میں۔ عملی ہوا۔ نشہ آوری میں۔ پردرب چرائے ۔ دوسروں کا سرمایہ چوری کرنے میں (3) جوگ ۔ تپ ۔ پوجا۔ جوگ سادھن۔ تپسیا ۔ پرستش۔ روگ ۔ بیماری ۔ سوگ۔ افسوس۔ بھر میجا۔ بھٹکنے مراد گمراہی میں۔ پون دھار۔ سانس ذہن میں چڑھانے ۔ پرانا یام کر نے میں۔ کرتن گائے حمدوثناہ کرنے میں ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا صدیوی ہے اور یہ عالم اور ساری قائنات اُسی ی ہی پیدا کی ہے ۔ سب کا مالک ہے واحد خدا (1) رہاؤ۔ کسی کی عمر دنیاوی محبت اور لُطف خوبصورتی اور نعمتوں کے لطف اور لذتوں میں گذر جاتی ہے کسی کی ماں باپ اور بیٹے کی محبت میں گذر جاتی ہے کسی کی زمیداری اور زمین کی ملکیت اور تجارت میں گذر جاتی ہے ۔ مگر روحانی رہبر خدا رسیدہ سنت کی عمر الہٰی نام سچ و حقیقت کے آسرا گذرتی ہے (1) کسی کی مذہبی کتابوں ویدوں وغیرہ کے مطابلعہ اور بحث مباحثے میں گذر تی ہے ۔ کسی کی زبان کی لذتوں میں بسر ہوتی ہے ۔ کسی کی عورت سے شہوت کی لگن میں گذرتی ہے ۔ مگر روحانی رہبر سنت الہٰی نام سچ و حقیقت میں محو رہتے ہیں (2) کسی کی جوئے بازی میں گذر جاتی ہے ۔ کسی کی نشے میں گذر جاتی ہے ۔ کسی کی دوسروں کا سرمایہ چرانے میں گذرتی ہے ۔ مگر خاامد خدا کی عمر الہٰی نام سچ و حقیقت میں دھیان لگانے میں گذرتی ہے (3) کسی کی جوگیوں والے سادھنوں میں کسی کی دیو تاؤں کی پرستش میں کسی کی بیماری غمگینی اور بھٹکن میں گذرتی ہے ۔ کسی کی پرانا یا م مراد سانس ذہن میں چڑھانے میں گذر جاتی ہے ۔ مگر سنت کی عمر الہٰی حمدوثناہ میں گذرتی ہے ۔

کاہوُبِہاۄےَدِنُریَنِچالت॥
کاہوُبِہاۄےَسوپِڑُمالت॥
کاہوُبِہاۄےَبالپڑاۄت॥
سنّتبِہاۄےَہرِجسُگاۄت॥੫॥
کاہوُبِہاۄےَنٹناٹِکنِرتے॥
کاہوُبِہاۄےَجیِیائِہہِرتے॥
کاہوُبِہاۄےَراجمہِڈرتے॥
سنّتبِہاۄےَہرِجسُکرتے॥੬॥
کاہوُبِہاۄےَمتامسوُرتِ॥
کاہوُبِہاۄےَسیۄاجروُرتِ॥
کاہوُبِہاۄےَسودھتجیِۄت॥
سنّتبِہاۄےَہرِرسُپیِۄت॥੭॥
جِتُکولائِیاتِتہیِلگانا॥
ناکوموُڑُنہیِکوسِیانا॥
کرِکِرپاجِسُدیۄےَناءُ॥
نانکتاکےَبلِبلِجاءُ॥੮॥੩॥
لفظی معنی:
چالت ۔ چلنے یا سفر میں۔ سوپڑ مالت۔ میدان جنگ میں۔ بال ۔ پڑاوت ۔ بچے پڑھانے میں۔ ہر جس ۔ الہٰی صفت صلاح (5) ڈنٹ ناٹک نرتے ۔ تامشے ۔ درامے اور ناش۔ جیئہ پرتے ۔ جانداروں کو مارنے میں۔ راج۔ حکومت ۔ ڈرتے ۔ خوفزدہ (6) متا۔ سورت۔ صلاح مشوروں ۔ سیوا ضرورت۔ خدمت کی ضرورت ۔ سودھت ۔ جیوت۔ زندگی کی درستی میں۔ ہر رس پیوت ۔ الہٰی لطف اُٹھانے میں (7) جت ۔ جس ۔ کو ۔ کسی کو ۔لگائیا۔ خدا نے لگائیا ۔ تت ۔ اسی میں۔ موڑ ۔ بیو قوف۔ سیانا۔ دانشمند۔ بل بل ۔ قربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
کسی کی روز وشب سفر میں ہی گذرتی ہے کسی کی میدان جنگ میں کسی کی بچے پڑھانے میں عمر گذر جاتی ہے ۔ مگر روحانی رہبر سنت اپنی زندگی الہٰی حمدوثناہ میں گذارتا ہے (5) کسی کی ڈرامے کھیلنے اور ناچ کرنے میں کسی کی قتل و غارت کرنے میں کسی کی حکومت کے خوف میں عمر اور زندگی گذرتی ہے ۔ مگر روحانی رہبر اور سنت الہٰی صفت صلاح میں گذرتی ہے کسی کی خدمت کی ضرورت میں اور کسی کی اپنی زندگی کو راہ راست پر لانے میں ہی ساری عمر گذر جاتی ہے مگر روحانی رہبر پر لانے میں ہی ساری عمر گذرجاتی ہے ۔ مگر روحانی رہبر پارساسنت ۔ آب حیات الہٰی نام سچ حق و حقیقت کا لطف لینے میں گذرتا ہے (7) مگر اے دنیا کے لوگوں دراصل نہ کو ئی بیوقوف ہے نہ دانشمند جس طرح خدا لگاتا ہے اسی کام میں انسان لگتا ہے ۔ جسے خدا اپنی کرم و عنایت سے نام کی بخشش کرتا ہے نانک قربان ہے اس پر ۔

رامکلیِمہلا੫॥
داۄااگنِرہےہرِبوُٹ॥
ماتگربھسنّکٹتےچھوُٹ॥
جاکانامُسِمرتبھءُجاءِ॥
تیَسےسنّتجناراکھےَہرِراءِ॥੧॥
ایَسےراکھنہاردئِیال॥
جتکتدیکھءُتُمپ٘رتِپال॥੧॥رہاءُ॥
جلُپیِۄتجِءُتِکھامِٹنّت॥
دھنبِگسےَگ٘رِہِآۄتکنّت॥
لوبھیِکادھنُپ٘رانھادھارُ॥
تِءُہرِجنہرِہرِنامپِیارُ॥੨॥
کِرسانیِجِءُراکھےَرکھۄالا॥
ماتپِتادئِیاجِءُبالا॥
پ٘ریِتمُدیکھِپ٘ریِتمُمِلِجاءِ॥
تِءُہرِجنراکھےَکنّٹھِلاءِ॥੩॥
جِءُانّدھُلےپیکھتہوءِاننّد॥
گوُنّگابکتگاۄےَبہُچھنّد॥
پِنّگُلپربتپرتےپارِ॥
ہرِکےَنامِسگلاُدھارِ॥੪॥
لفظی معنی:
اگن ۔ آگ۔ رہے ہر ۔ لوٹ۔ ہرے بوٹے یا پورے رہ جاتے ہیں۔ مات گربھ میں۔ ماتا کے پیٹ مینہ ۔ سنکٹ ۔ مصیبت۔ بھو ۔ خوف۔ راکھے ۔ حفاظت کرتا ہے ۔ ہر رائے ۔ خدا (1) راکھنہار دیال۔ حفاظت کی توفیق رکھنے والا مہربان۔ جت کت۔ جہاں کہیں۔ پرتپال۔ پرورش کرنے والا۔ رہاؤ۔ جل پیوت۔ پانی پینےس ے ۔ تکھا ۔ پیاس۔ مٹنت۔ مٹی ہے ۔ دھن۔ عورت۔ بیوی ۔ زوجہ ۔ وگسے ۔ خوش ۔ گریہہ آوت کنت۔ جب خاوند گھر آتا ہے ۔ لوبھی ۔ لالچی دھن ۔ سرمایہ ۔ پران ادھار ۔ زندگی کا آسرا۔ ہر جن۔ خدمتگار ۔ خدا۔ ہر نام پیار۔ الہٰی نام سچ و حقیقت سے محبت (2) کر سانی کا شتکاری ۔ رکھوا۔ا رکھاا ۔ کھیت کا نگہبان ۔ بالا ۔ بچے ۔ پریتم ۔ پیارا ۔ تیوں ۔ انسے ہی ۔ ہر ۔ خدا ۔ جن راکھے ۔ خدمتگار کی حفاطت کرتا ہے خدا ۔ کنٹھ لائے گلے لگا کر (3) اندھلے ۔ اندھے کو۔ پیکھت ۔ دیکھ کر۔ انند۔ پر سکون۔ خوش۔ گونگا بکت ۔ گونگا ۔ بول کر ۔ پنگل پریت پار ۔ پنگلا پہاڑ عبور کرکے ۔ پر کے نا سگلی ادھار ۔ الہٰی نام سے مراد سچ و حقیقت سے سب کو آسرا ملتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تو ایسا محافظ و مہربان ہے ۔ جدھر جاتی ہے نظر ہے تو ہے وہاں پرورش کر رہا (1) رہاؤ۔ جیسے جنگل کی آگ ہرے بھرے پودے میں رہ جاتے ہیں ۔ بچہ ماں کے پیٹ میں محفوظ رہتا ہے ۔ جس کے نام کی یاد سے خوف مٹ جاتا ہے ۔ ایسے ہی روحانی رہبر خدمتگار خدا سنتہوں کو خدا اپنی حفاظت میں رکھتا ہے (1) جیسے پانی پینے سے پیاس بجھتی ہے اور خاوند کے ملاپ سے اس کے گھر آنے پر اس کی بیوی خوش ہوتی ہے ۔ لالچی کے لئے دولت آسرا ہے ۔ ایسے ہی خدمتگار خدا کی رکھوالی کرتا ہے ۔ جیسے ماں باپ مہربان ہوتے ہیں ۔ اپنے بچے پر ۔ جسے دوست اپنے پیارے دوست سے ملتا ہے ۔ اس طرح ایسے خدا اپنے خدمتگار کو اپنے گلے لگا کر رکھتا ہے (3) جیسے اندھے کو قوت بینائی ملنے سے روحانی و ذہنی سکون ملتا ہے ۔ جیسے گونگے قوت گویائی ملنے پر وہ نظمیں گاتا ہے ۔ جیسے پنگلا پریت یا پہاڑ عبور کرکے خوش ہوتا ہے ۔ ایسے ہی نام سچ و حقیقت سے ساری خلقت کو سکون اور خوشی حاصل ہوتی ہے ۔ کامیابی حاصل ہوتی ہے ۔

جِءُپاۄکسنّگِسیِتکوناس॥
ایَسےپ٘راچھتسنّتسنّگِبِناس॥
جِءُسابُنِکاپراوُجلہوت॥
نامجپتسبھُبھ٘رمُبھءُکھوت॥੫॥
جِءُچکۄیِسوُرجکیِآس॥
جِءُچات٘رِکبوُنّدکیِپِیاس॥
جِءُکُرنّکنادکرنسمانے॥
تِءُہرِنامہرِجنمنہِسُکھانے॥੬॥
تُمریِک٘رِپاتےلاگیِپ٘ریِتِ॥
دئِیالبھۓتاآۓچیِتِ॥
دئِیادھاریِتِنِدھارنھہار॥
بنّدھنتےہوئیِچھُٹکار॥੭॥
سبھِتھاندیکھےنیَنھالوءِ॥
تِسُبِنُدوُجااۄرُنکوءِ॥
بھ٘رمبھےَچھوُٹےگُرپرساد॥
نانکپیکھِئوسبھُبِسماد॥੮॥੪॥
لفظی معنی:
پاوک ۔ آگ۔ ہیت ۔ سردی ۔ٹھنڈک ۔ پراچھت ۔ گناہ ۔ سنت سنگ۔ صحبت و قربت و ساتھ روحانی رہبر خدا رسیدہ سنت کی ۔ بناس۔ مٹ جاتا ہیں۔ کاپر ۔ کپڑے ۔ اُجل ۔ صاف۔ نام چت ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کی یادوریاض سے ۔ بھرم بھوکوت ۔ وہم وگمان اور خوف مٹ جاتا ہے (5) چاترک ۔ پیہا ۔ بنیہا ۔ سارنگ ۔ کرنگ ۔ ہرن ۔ ناد کرن ۔ سمانے ۔ جیسے ہرن کو گھنڈے بیڑے کی آواز مست کر دیتی ہے ۔ تینوں ایسے ہی ہر نام الہٰی نام ۔ ہرجن ۔ خدمتگار خدا۔ منہ سکھانے ۔ من کو سکھ یا آرا م پہنچاتا ہے ۔ (6) تمری کر پاتے لاگی پریت ۔ دیال بھیئے تا آئی چیت ۔ دیادھاری تن دھارنہار۔ بندھن نے ہوئی چھکار ۔
کرپا ۔ مہربانی ۔ پریت۔ پیار ۔ دیال بھیئے ۔ مہربان ہوئے ۔ دھارنہار۔ جس میں دھارنے یا کرنے کی توفیق یا قوت ہے ۔ بندھن۔ غلامی ۔ چھٹکار ۔ آزادی ۔ تجات (7) نین ۔ الوئے ۔ آنکھیں کھول کر ۔ مراد دھیان مرکوز کرکے ۔ بھرم بھے ۔ وہم و گمان اور خوف ۔ گر پر ساد ۔ رحمت مرشد سے ۔ پیکھو ۔د یکھیا۔ بسما ۔ حیران کن ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے آگ سے سردی ختم ہوجاتی ہے ۔ ایسے روحانی رہبر خدا رسیدہ پاکدامن سنت کے صحبت و قربت اور ساتھ سے گناہ مٹ جاتے ہیں۔ جیسے صابن سے کپڑے صاف ہوجاتے ہیں ایس ہی الہٰی یادوریاض سے ہر طرح کے وہم وگمان اور خوف مٹ جاتا ہے (5) جیسے چکوی سورج کا انتظار کرتی ہے ۔ جیسے پیہے کو آسمانی بوند کی پیاس رہتی ہے ۔ جیسے ہرن کے کانوں کو گھنڈے ہیڑے کی آواز میں محو ہوجاتے ہیں۔ ایسے ہی خدائی خدمتگاروں کو الہٰی نام سچ حق و حقیقت سے دل کو تسکین حاصل ہوتی ہے (6) اے خدا تیری کرم و عنایت سے ہی دل میں ہوتا ہے پیار پیدا جب ہوتا ہے مہربان تو تبھی تو دل میں بستا ہے ۔ جب تیری کرم و عنایت ہوتی ہے ۔ تبھی ذہنی اور اخلاقی غلامیوں سے نجات ملتی ہے (7) آنکھیں کھلول دھیان لگا کر سب جگہوں کا نظارہ کر دیکھا نہیں تجھ سا اور مقام کوئی ۔ رحمت مرشد سے سبھ وہم و گمانں اور خوف مٹتے ہرجا اسی کا ہے عجب نظارہ نانک ۔

رامکلیِمہلا੫॥
جیِءجنّتسبھِپیکھیِئہِپ٘ربھسگلتُماریِدھارنا॥੧॥
اِہُمنُہرِکےَنامِاُدھارنا॥੧॥رہاءُ॥
کھِنمہِتھاپِاُتھاپےکُدرتِسبھِکرتےکےکارنا॥੨॥
کامُک٘رودھُلوبھُجھوُٹھُنِنّداسادھوُسنّگِبِدارنا॥੩॥
نامُجپتمنُنِرملہوۄےَسوُکھےسوُکھِگُدارنا॥੪॥
بھگتسرنھِجوآۄےَپ٘رانھیِتِسُایِہااوُہانہارنا॥੫॥
سوُکھدوُکھاِسُمنکیِبِرتھاتُمہیِآگےَسارنا॥੬॥
توُداتاسبھناجیِیاکاآپنکیِیاپالنا॥੭॥
انِکبارکوٹِجناوُپرِنانکُۄنّجنْےَۄارنا॥੮॥੫॥
لفظی معنی:
جیئہ جنت۔ ساری مخلوقات ۔ سگل ۔ دھارتا۔ سارے آسرے (1) اُدھارنا۔ کامیاب (1) رہاؤ۔ کھن میہہ۔ آنکھ جھپکنے کی دیر میں۔ تھاپ ۔ اُتھاپے ۔ پیدا کرکے مٹادے ۔ کرتے ۔ کرتار ۔ خدا۔ کارتا۔ کارن ۔ طریقے ۔ سبب (2) بدارنا۔ مٹانا (3) نرمل ۔ پاک ۔ سوکھے سوکھ ۔ آرام وآسائش ۔ گدارنا ۔گذارنا (4) بھگت۔ خدائی خدمتگار ۔ پریمی (5) برتھا۔ حالت۔ سارنا۔ کیجاسکتی ہے (6) اپنا کیا پالنا۔ اپنے پیدا کئے ہوئے کی پرورش کرنا ہے (7) انک بار۔ بیشمار بار ۔ ونجھے ۔ قربان
ترجمہ معہ تشریح:
اس د ل کو الہٰی نام سچ و حقیقت کے ذریعے بچائیا جا سکتا ہے (1) رہاؤ۔ اے خدا جتنی مخلوقات دکھائی دے رہی ہے یہ سارے تیرے ہی آسرے ہیں (1) خدا آنکھ جھپکنے کے عرصے میں پیدا کرکے مٹا دیتا ہے ۔ یہ سارے کا رساز کرتار کے کرشمے ہیں (2) شہوت ۔ غصہ ۔ لالچ ۔ اور کفر خدا رسیدہ پاکدامن کی صحبت و قربت سے مٹائے جا سکتے ہیں (3) الہٰی یاد وریاض سے دل پاک ہوجاتا ہے اور زندگی آرام و آسائش میں گذرتی ہے (4) جو انسان خدائی خدمتگاروں کے زیر سایہ آتا ہے وہ ہر دوعالموں میں زندگی کے کھیل میں زندگی کی شکست نہیں کھاتا (5) عذاب و آئش کی فریاد اس دل کے حالات تیرے پاس ہی پیش ہو سکتے ہیں (6) اے خدا تو سب کو نعمتیں عنایت کرنے والا ہے اور اپنے پیدا کئے ہوئے مخلوقات کی پرورش کرنے والا ہے (7) اے خدا نانک تیرے عابدوں خدمتگاروں پر کروڑوں بار صدقے جاتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫اسٹپدیِ
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
درسنُبھیٹتپاپسبھِناسہِہرِسِءُدےءِمِلائیِ॥੧॥
میراگُرُپرمیسرُسُکھدائیِ॥
پارب٘رہمکانامُد٘رِڑاۓانّتےہوءِسکھائیِ॥੧॥رہاءُ॥
سگلدوُکھکاڈیرابھنّناسنّتدھوُرِمُکھِلائیِ॥੨॥
پتِتپُنیِتکیِۓکھِنبھیِترِاگِیانُانّدھیرُۄنّجنْائیِ॥੩॥
کرنھکارنھسمرتھسُیامیِنانکتِسُسرنھائیِ॥੪॥
بنّدھنتوڑِچرنکملد٘رِڑاۓایکسبدِلِۄلائیِ॥੫॥
انّدھکوُپبِکھِیاتےکاڈھِئوساچسبدِبنھِآئیِ॥੬॥
جنممرنھکاسہساچوُکاباہُڑِکتہُندھائیِ॥੭॥
نامرسائِنھِاِہُمنُراتاانّم٘رِتُپیِت٘رِپتائیِ॥੮॥
سنّتسنّگِمِلِکیِرتنُگائِیانِہچلۄسِیاجائیِ॥੯॥
پوُرےَگُرِپوُریِمتِدیِنیِہرِبِنُآننبھائیِ॥੧੦॥
نامُنِدھانُپائِیاۄڈبھاگیِنانکنرکِنجائیِ॥੧੧॥
لفظی معنی:
درسن بھٹت۔ دیدار کرتے ہی ۔ پاپ ۔ گناہ ۔ ہر سیو ۔ خدا سے گر ۔ مرشد۔ پرمیسر۔ خدا۔ سکھدائی ۔ آرام پہنچاتے ہیں۔ پار برہم۔ کامیابی بخشنے والا۔ درڑائے ۔ پختہ کرئے ۔ انتے ۔ بوقت ۔ آخرت ۔ سکھائی ۔ ساتھی ومددگار(1) رہاؤ ۔ سگل دوکھ ۔س ارے عذاب کا ۔ ڈیرہ ۔ ٹھکانہ ۔ بھنا۔ مٹانا۔ سنت ۔ دہور۔ روحانی رہبر پاکدامنوں کی دہول ۔ مکھ ۔ چہرے (2) پتت۔ ناپاک۔ بداخلاق۔ بد چلن ۔ پنیت۔ پاک ۔ خوش اخلاق۔ نیک ۔ چلن ۔ ناپاک۔ بداخلاق۔ بد چلن ۔ پنیت ۔ پاک ۔ خوش اخلاق ۔نیک چلن ۔ کھن بھیتر ۔ آنکھ جھپکنے کے عرصے میں۔ اگیان اندھیر ونجھائی۔ لا علمی نا سمجھی کا اندھیرا دور کیا (3) کارن کرن ۔ سوآمی ۔ سبب پیدا کرنے ک مالک والا۔ سمرتھ ۔ با توفیق ۔ طاقت رکھنے والا۔ تس سرنائی ۔ اس کے زیر پناہ (4) بندھن ۔ غلامی ۔ چرن کمل۔ پائے پاک۔ درڑائے ۔ پختہ کئے ۔ سبد کلام۔ لو۔ لگن ۔ پیار۔ اندھ کوپ ۔ اندھے کوئیں سے ۔ بکھیا۔ برائیوں ۔ دنیاوی دولت ۔ ساچ سبد۔ صدیوی سچے کلام (6) سہسا۔ فکر مندی ۔ خوف۔ چوکا۔ مٹا۔ باہڑ۔ دوبارہ۔ کتہو ۔ کہیں۔ دھائی ۔ بھٹکتا (7) نام رسائن ۔ پر لطف نام ۔ سچ و حقیقت پر مبنی لطف و مزے ۔ رتا۔ محو۔ متاثر۔ا نمرت ۔ آبحیات ۔ ایسا پانی جس سے زندگی اخلاقی و روحانی ہوجاتی ہے ۔ ترپتائی ۔ تلسی ہوئی ۔ تسکین ملا (8) سنت سنگ۔ روحانی رہبر کے ساتھ ملکر۔ کیرتن ۔ حمدوثناہ ۔ نہچل۔ مستقل ۔ وسیا۔ آباد (9) پورے گر۔ کامل مرشد۔ پوری مت پوری سمجھ۔ آن دوسرا (10) نام ندھان ۔ سچ ۔ حق و حقیقت کا خزانہ ۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت سے ۔ نرک ۔ دوزخ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا اور مرشد تمام آرام و آسائش پہنچانے والا ہے ۔ الہٰی نام سچ حق و حققیقت دل میں پختہ کراتا ہے اور بوقت اخرت مددگار بنتا ہے (1) رہاؤ۔ جو روحانی رہبر پاکدامن خدائی خدمتگار کے پاؤں کی دہول پیشانی پر لگاتا ہے ۔ مراد اس پر یقین و ایمان لاتا ہے ۔ اس کے تمام عذاب و مصائب مٹ جاتےہیں (2) انسان کے دیدار کرتے ہی تمام گناہ دور ہوجاتے ہیں مٹ جاتے ہیں اور وہ خدا سے ملاپ کرا دیتا ہے (1) وہ بد اخلاق بد چلن ناپاک کو آنکھ جھپکنے کے عرصے میں ہی نیک چلن خوش اخلاق اور نا سمجھی بے عملی کا اندھیرا مٹا دیتا ہے (3) اے نانک۔ خدا ہی سارے علام کی بنیاد ہے اور ساری ہمیشہ قسم کی طاقتوں والا با توفیق ہے نانک اس کے زیر سایہ ہے ۔ (4) مرشد دنیاوی دولت اور ذہنی غلامی ختم کرا کر واحد کلام الہٰی سے محبت بنو ا دیتا ہے (5) انسان کو دنیاوی دولت کےا ندھے کوئیں سے نکال کر سچے الہٰی کلام سے اُسکا پیار محبت پیدا کر دیتا ہے (6) اس کی تناسخ کی فکر مندی ختم ہوجاتی ہے وہ دوبارہ بھٹکن میں نہیں پڑتا (7) الہٰی نام سچ حق و حقیقت کے لطفوں کے گھر سے لطف لیکر یہ دل اس روحانی زنگانی بنانے والے قلب حیات نوش کرکے تسکین پاتا ہے (8) روحانی رہبر خدا رسیدہ پاکدامن (س نت) کی صحبت و قربت میں الہٰی حمدوثناہ سے انسان مستقل مزاجی و روحانی وذہنی سکون پاتا ہے (9) کامل مرشد کامل سمجھ دیتا ہے اُسے کہ خدا کے بغیر نہیں پیار ہوتا کسی دوسرے سے (10) سچ حق و حقیقت کا خزانہ الہٰی نام خوش قمستی سے ملتاہ ے ۔ اے نانک اُسے دوزخ میں جانا نہیں پڑتا (11)

گھالسِیانھپاُکتِنمیریِپوُرےَگُروُکمائیِ॥੧੨॥
جپتپسنّجمسُچِہےَسوئیِآپےکرےکرائیِ॥੧੩॥
پُت٘رکلت٘رمہابِکھِیامہِگُرِساچےَلاءِترائیِ॥੧੪॥
اپنھےجیِءتےَآپِسم٘ہالےآپِلیِۓلڑِلائیِ॥੧੫॥
ساچدھرمکابیڑاباںدھِیابھۄجلُپارِپۄائیِ॥੧੬॥
بیسُماربیئنّتسُیامیِنانکبلِبلِجائیِ॥੧੭॥
لفظی معنی:
گھال ۔ محنت و مشقت ۔ سیانپ ۔ محنت دانشمندی ۔ اکت ۔ دلیل۔ پورے گرو ۔ کامل مرشد۔ کمائی۔ محنت کار ۔ جپ ۔ ریاض ۔ تپسیا ۔ سنجم۔ پرہیز گاری ۔ ضبط۔ سچ بیرونی پاکیزگی ۔ صفائی ۔ سوئی ۔ وہی ۔ آپے کرے کرائی ۔ جو خود کرتا اور کراتا ہے (13) پتر ۔ فرزند۔ بیٹا۔ کلتر ۔ عورت ۔ بیوی ۔ زوجہ ۔ بکھیا ۔ مائیا۔ دنیاوی دولت ۔ گر سچے مرشد نے ۔ ترائی ۔ کامیابی (15) جیئہ ۔ جاندار۔ سمہاے ۔ سنبھال کی ۔ لڑ۔ دامن (15) ساچ دھرم۔ صدیوی فرائض انسنای ۔ بیڑاباندھیا۔ کشتی تیار کی جہاز بنائیا۔ بھوجل۔ خوفناک سمندر۔ پار پواآئی ۔ عبور کرنے کے لئے (16) بیشمار ۔ اتنا زیادہ جو گنتی نہ ہو سکے ۔ بے انت۔ اتنا وسیع جس کی انت با آخر نہ آئے ۔ سوآمی ۔ مالک
ترجمہ معہ تشریح:
نہ محنت و مشقت نہ سمجھداری صرف کامل مرشد کا ہے کارنامہ بخشش (12) ریاض ۔ تپسیا پرہیز گاری اور صفائی پاکیزگی وہی کرتا اور کارساز کراتا ہے (13) فرزند اور بیوی اور دنیاوی دولت کی زہر سے سچا مرشد اس کو عبور کرا کے زندگی کامیاب بنواتا ہے (14) اے خدا جن کو تو نے خود پیدا کیا ہے خود ہی سنبھال کرتا ہے اور خود ہی اپنے دامن لگاتا ہے (15) سچے انسان فرائض کی انجام دہی کے لئے ایک جہاز تیار کر لیا ہے ۔ جس سے اس دنیاوی زندگی خوفناک سمندر کو عبور کیا جا سکے (16) خدا جو اعداد و شمار سے باہر جس کی کو آخرت نہیں نانک اُس پر قربان ہے ۔

اکالموُرتِاجوُنیِسنّبھءُکلِانّدھکاردیِپائیِ॥੧੮॥
انّترجامیِجیِئنکاداتادیکھتت٘رِپتِاگھائیِ॥੧੯॥
ایکنّکارُنِرنّجنُنِربھءُسبھجلِتھلِرہِیاسمائیِ॥੨੦॥
بھگتِدانُبھگتاکءُدیِناہرِنانکُجاچےَمائیِ॥੨੧॥੧॥੬॥
لفظی معنی:
اکال۔ ایسی ہستی جو صدیوی ہے لافناہ ہے ۔ مورت ۔ شکل ۔ صورت ۔ اجونی ۔ جو پیدا نہیں ہوتی ۔ جنم میں نہیں آتی ۔ سنبھو۔ از خود ہے ۔ آپنے آپ سے ہے ۔ کل ۔ جھگڑا ۔ کل پگ ۔ جھگڑے کے دور میں ۔ اندھکار ۔ اندھیرے ۔ ایسی دنیا جو عقل و ہوش سے باہر ہے ۔ دیپائی ۔ روشن چراغ (18) انتر جامی ۔ اندرونی دلی راز کو سمجھنے والا۔ جیئن کا داتا ۔ زندگی بخشنے والا۔ دیکھت ۔ دیدار سے ۔ ترپت اگھائی ۔ دل کی تسلی ہوجاتی ہے ۔ تسکین ملتا ہے (19) ایکنکار ۔ ایک اور سارا آکار۔ جو اتنا بڑا با وسعت ہے سارا عالم وقئنات قدرت اس کے آکار میں ہے ۔ مراد سب میں اور سب جگہ ہے ۔ نرنجن نر۔ انجن۔ نر ۔ بغیر۔ انجن ۔ سرمہ مراد بغیر کالخ داغ یا دھبے کے پاک مراد۔ نربھو۔ نر۔ بغیر بھو۔ خوف۔ بیخوف۔ جل تھل۔ زمین اور سمندر۔ رہیا سمائی ۔ بستا ہے ۔ موجود ہے (20) بھگت دان ۔ عشق الہٰی۔ عاشقان الہٰی کو دیا۔ نانک جاپے مائی۔ اے مان ۔ نانک مانگتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا موت سے بالا پاک جنم سے قائم اپنے آپ ۔ اندھیرے عالم کو کرتا ہے روشن (18) دل کے پوشیدہ رازوں کو جانے والا سبھ کو نعمتوں سے سر فراز کرنے والا جس کے دیدار سے تسکین ملتی ہے ۔ خواہشات کی تشنگی مٹ جاتی ہے (19) سبھ میں بسنے والا خدا واحد جو پاک ہے بے خوف ہے زمین و سمندر ہر جائی بستا ہے (20) اے ماں عشق الہٰی عبادت وریاض الہٰی اپنے پریمی خدمتگاروں کو دیتا ہے نانک اس کی خیرات مانگتا ہے ۔

رامکلیِمہلا੫॥
سلوکُ॥
سِکھہُسبدُپِیارِہوجنممرنکیِٹیک॥
مُکھُاوُجلُسداسُکھیِنانکسِمرتایک॥੧॥
منُتنُراتارامپِیارےہرِپ٘ریمبھگتِبنھِآئیِسنّتہُ॥੧॥
ستِگُرِکھیپنِباہیِسنّتہُ॥
ہرِنامُلاہاداسکءُدیِیاسگلیِت٘رِسناُلاہیِسنّتہُ॥੧॥رہاءُ॥
کھوجتکھوجتلالُاِکُپائِیاہرِکیِمتِکہنھُنجائیِسنّتہُ॥੨॥
چرنکملسِءُلاگودھِیاناساچےَدرسِسمائیِسنّتہُ॥੩॥
گُنھگاۄتگاۄتبھۓنِہالاہرِسِمرتت٘رِپتِاگھائیِسنّتہُ॥੪॥
آتمرامُرۄِیاسبھانّترِکتآۄےَکتجائیِسنّتہُ॥੫॥
آدِجُگادیِہےَبھیِہوسیِسبھجیِیاکاسُکھدائیِسنّتہُ॥੬॥
آپِبیئنّتُانّتُنہیِپائیِئےَپوُرِرہِیاسبھٹھائیِسنّتہُ॥੭॥
میِتساجنمالُجوبنُسُتہرِنانکباپُمیریِمائیِسنّتہُ॥੮॥੨॥੭॥
لفظی معنی:
سکھو ۔ سمجھو۔ سبد پیاریو ۔ کلام سے پیار کرنے والا۔ ٹیک۔ آسرا ۔ مکھ اُجل۔ سر خرو۔ سمرت ایک۔ واحد یاد خدا سے (1) من تن ۔ راتا۔ دل و جان متاثر ہے محو ہے ۔ ہر پریم بھگت بن آئی ۔ الہٰی عشق و پیار ۔ اب میری عادت ہوگئی ہے (1) کھیپ ۔ سوداگری کا مال۔ نبھا ہی ۔ پوری کی ۔ ہر نام۔ الہٰی نام۔ سچ حق و حققیقت ۔ لاہا۔ منافع۔ داس۔ خادم۔ ترسن۔ پیاس۔ اُلاہی ۔ بجھائی۔ اُتاری (1) رہاؤ۔ کھوجت کھوجت۔ ڈہونڈتے ڈہونڈتے ۔ لعل ۔ ایک قیمتی پتھر (2) چرن کمل۔ پائے پاک ۔ دھیانا۔ توجہ ۔ ساچے درس۔ صدیوی سچا دیدار ۔ سمائی ۔ محو (3) نہالا۔ خوشدل ۔ ترپت اگھائی۔ مکمل تسلی (4) آتم ۔ رام ۔ا لہٰی نور۔ کدا۔ کت ۔ کہاں (5) آد۔ آغاز عالم ۔ جگادی ۔ مابعد کے دور میں ۔ ہے بھی ۔ آج بھی ہے ۔ ہو سی ۔ آئندہ بھی ہوگا۔ سکھدائی ۔ آرام وآسائش پہنچانے والا (6) پاییئے ۔ پائیا جاسکتا ہے ۔ پوررہیا۔ بستا ہے ۔ سھ ٹھائی۔ سارے ٹھکانوں پر (7) میت ساجن۔ دوست ۔ یار ۔ مال۔ دولت ۔ جوبن ۔ جونای ست۔ بیٹا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے کلام سے پیار کرنے والوں کلام سیکھو مراد الہٰی حمدوثناہ کی عادت بناؤ۔ یہ تمام زندگی کو سہارا دیگا۔ اے نانک واحد خدا کی یادوریاض سے ہمیشہ سر خرورہو گے (1) اے سنتہو جس شخص کا دل و جان الہٰی پریم پیار سے متاثر رہتاہ ے ۔ الہٰی عشق اور پریم پیار کی وجہ سے خدا سے رشتہ قائم ہوجاتاہے ۔ (1) اے روحانی رہبر سنتہو ۔ سچے مرشد نے الہٰی نام سچ حق و حقیقت کا منافع عنایت کیا اس طرح سےا ُس کی دنیاوی خواہشات کی تشنگی مٹا دی (1) رہاؤ۔ ڈہونڈے ڈہونڈتے ایک الہٰی نام کا قیمتی لعل دستیاب ہوا ۔ جس کی قیمت مقرر نہیں کی جا سکتی (2) پائے الہٰی میں دھیان لگا اور سچے دیدار میں محو ومجذوب ہوا (3) الہٰی حمدوثناہ دل سے کھلا خوشی محسوس ہوئی ۔ الہٰی یادوریاض سے تسکین حاصل ہوئی تسلی ملی اور کوئی خواہش باقی نہ رہی (4) جسے سبھ کے اندر بستا خدا کا دیدار ہوجاتا ہے ۔ اسکا آواگون ختم ہوجاتا ہے (5) خد آغاز عالم سے ہے آج بھی ہے آئندہ بھی ہوگا ہر زمانے میں تھا اے سنتہو سب کو آرام پہنچانے والا مددگار ہے (6) اے سنتہو خدا اعداد و شمار سے بعید و بالا ہے نہ اس کی کوئی آخرت ہے ج کہ ہر جگہ ہر دل میں بستا ہے (7) اے نانک۔ خدا ہی ہے جب کہ ہر جگہ ہر دل میں بستا ہے (7) اے نانک خدا ہی میرا دوست سرامیہ جوانی بیٹا اور ماں باپ ہے سنتہو۔

رامکلیِمہلا੫॥
منبچک٘رمِرامنامُچِتاریِ॥
گھوُمنگھیرِمہااتِبِکھڑیِگُرمُکھِنانکپارِاُتاریِ॥੧॥رہاءُ॥
انّترِسوُکھاباہرِسوُکھاہرِجپِملنبھۓدُسٹاریِ॥੧॥
جِستےلاگےتِنہِنِۄارےپ٘ربھجیِءُاپنھیِکِرپادھاریِ॥੨॥
اُدھرےسنّتپرےہرِسرنیِپچِبِنسےمہااہنّکاریِ॥੩॥
سادھوُسنّگتِاِہُپھلُپائِیااِکُکیۄلنامُادھاریِ॥੪॥
نکوئیِسوُرُنکوئیِہیِنھاسبھپ٘رگٹیِجوتِتُم٘ہ٘ہاریِ॥੫॥
تُم٘ہ٘ہسمرتھاکتھاگوچررۄِیاایکُمُراریِ॥੬॥
کیِمتِکئُنھُکرےتیریِکرتےپ٘ربھانّتُنپاراۄاریِ॥੭॥
نامدانُنانکۄڈِیائیِتیرِیاسنّتجنارینھاریِ॥੮॥੩॥੮॥੨੨॥
لفظی معنی:
من۔ دل ۔ بچ۔ بچن۔ بول ۔ کلام۔ رام نام۔ الہٰی نام ۔ سچ حق و حقیقت ۔ چتایر ۔ یاد کر۔ گھومن گھیر ۔ بھنور۔ چکر ۔ ات بکھڑی ۔ نہایت دشوار۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد ۔ پار اُتاری ۔ کامیاب بناتا ہے (1) رہاؤ۔ انتر سوکھا ۔ دل سکھی ۔ باہر سوکھا۔ دنیاوی طور پر سکھ ۔ ہر جپ ۔ الہٰی یادوریاض سے ۔ ملن بھیئے ۔ دبا دیئے گئے ۔ اہنکاری ۔ مغرور ۔ (3) سادہو سنگت ۔ صحبت پاکدامن سے ۔ ایہہ پھل۔ یہ نتیجہ ۔ کیول۔ صرف (4) اھاری ۔ آسرا۔ سور ۔ سورما۔ بہادر۔ پینا۔ کمزور۔ پر گٹی ۔ ظاہر ہوئی ۔ جوت ۔ نور (5) سمرتھ ۔ لائق ۔ با توفیق ۔ اکتھ ۔جس کے بابت بیان نہ ہو سکے ۔ اگوچر۔ جو انسانی عقل و ہو ش سے بعید ۔ رویا۔ بسیا۔ مراری ۔ خدا (6) انت ۔ آخر۔ پار اداری ۔ اتنا وسیع کہ کنارا نہیں (7) دیناری ۔ پاؤں کی دہول ۔
ترجمہ معہ تشریح:
دل سے بول کر اعمال سےا لہٰی نام سچ حق و حقیقت دل میں بسائیا کرؤ۔ اے نانک زندگی ایک بھنور ہے نہایت دشوار ہے ۔ مرید مرشد ہوکر اسے کامیاب بنائیا جا سکتا ہے (1) رہاؤ۔ ذہنی سکون سے دنیاوی طور پر آرام و آسائش اور یاد ور یاض سے اخلاقی و روحانی دشمنوں کو دبائیا جا سکتا ہے (1) الہٰی سایہ و پناہ کی وجہ سے بچ جاتے ہیں۔ مغرور روحانی واخلاقی طور پر جل کر روحانی موت مرتے ہیں (3) جس خدا نے ان برائیوں کو انسان سے وابسطہ کیا ہے ۔ وہی اپنی کرم و عنایت سے ان سے نجات دلاتا ہے (2) صحبت قربت پاکدامن خدا رسیدہ سے یہ نتیجہ اخذ کیا ہے ۔ کہ صرف الہٰی نام سچ و حق و حقیقت ہی انہوں نے اپنی زندگی کا آسرا بنائیا ہے (4) حقیقتاً نہ بہادر ہے نہ کمزور ہے ۔ سبھ میں اے خدا تیرا ہی نور و ظہور ہے (5 ) اے خدا تو تمام قوتوں کا مالک با توفیق آتا ہے ۔ تیری قوتیں بیان سے باہر اور انسانی عقل و ہوش سے بعید و بالا ہیں ۔ اے واحد خدا تو سب میں بستا ہے (6) اے خدا وہ کون اور کونسی ہستی ہے جو تیری قدر وقیمت کا اندازہ کر سکے جس کی کوئی آخر اور کنارہ ہی نہیں تیری وسعت کا (7) اے نانک۔ اے خدا تیرے خادمان خدا سنتہوں کے پاؤں کی دہول لیکر الہٰی نام سچ حق و حقیقت اور عظمت حاصل ہوتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੩اننّدُ
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
اننّدُبھئِیامیریِماۓستِگُروُمےَپائِیا॥
ستِگُرُتپائِیاسہجسیتیِمنِۄجیِیاۄادھائیِیا॥
راگرتنپرۄارپریِیاسبدگاۄنھآئیِیا॥
سبدوتگاۄہُہریِکیرامنِجِنیِۄسائِیا॥
کہےَنانکُاننّدُہویاستِگُروُمےَپائِیا॥੧॥
اےمنمیرِیاتوُسدارہُہرِنالے॥
ہرِنالِرہُتوُمنّنمیرےدوُکھسبھِۄِسارنھا॥
انّگیِکارُاوہُکرےتیراکارجسبھِسۄارنھا॥
سبھناگلاسمرتھُسُیامیِسوکِءُمنہُۄِسارے॥
کہےَنانکُمنّنمیرےسدارہُہرِنالے॥੨॥
لفظی معنی:
انند۔ پورن سکون اور مکمل خوشی۔ سہج سیتی ۔ مستقل مزاج سے ۔ ودھائی ۔ بلندی و برتی ۔جوش و خروش۔ راگ رتن ۔ بیش قیمت راگ۔ ہری کیرا۔ الہٰی (1) دوکھ سبھ وسارنا۔ سارے عذاب یا تکلیفات مٹآنا ۔ انگہکار۔ امدادی کارج ۔ کام ۔ مقصد۔ سمرتھ ۔ توفیق با توفیق رکھنے والا۔ ہر نالے ۔ الہٰی ساتھی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میری ماں سچے مرشد کے ملاپ سے مکمل سکون اور مکمل خوشی حاصل ہوتی ہے ۔ اب میں مستقل مزاجی حاصل کرلی ہے دلمیں جوش و خروش پیدا ہوگیا ہے جو ہر قسم کی توفیق رکھتا ہے ۔ اُسے کیوں دل سے بھلائیا جائے ۔ اے نانک بتادے ۔ کہ سچے مرشد کے ملاپ سے سکون اور خوشی حاصل ہوئی (1) اے دل ہمیشہ خدا کے ساتھ رہ جو ہر قسم کے عذاب و تکلیفات دور کرنے والا ہے ۔ وہ تیرا ساتھی اور مددگار ہوگا اور تیرے سارے کام مکمل ہونگے ۔ جو ہر طرح کی توفیق رکھنے والا ہے ۔ اُسے دل سے کیوں بھلائیا جائے ۔ نانک بیان کرتا ہے کہ اے دل سدا خدا کا ساتھی رہ ۔

ساچےساہِباکِیاناہیِگھرِتیرےَ॥
گھرِتتیرےَسبھُکِچھُہےَجِسُدیہِسُپاۄۓ॥
سداسِپھتِسلاہتیریِنامُمنِۄساۄۓ॥
نامُجِنکےَمنِۄسِیاۄاجےسبدگھنیرے॥
کہےَنانکُسچےساہِبکِیاناہیِگھرِتیرےَ॥੩॥
ساچانامُمیراآدھارو॥
ساچُنامُادھارُمیراجِنِبھُکھاسبھِگۄائیِیا॥
کرِساںتِسُکھمنِآءِۄسِیاجِنِاِچھاسبھِپُجائیِیا॥
سداکُربانھُکیِتاگُروُۄِٹہُجِسدیِیاایہِۄڈِیائیِیا॥
کہےَنانکُسُنھہُسنّتہُسبدِدھرہُپِیارو॥
ساچانامُمیراآدھارو॥੪॥
لفظی معنی:
ساچے صاحبا ۔ سچے آقا۔ سبد گھنیرے ۔ مکمل روحانی سکون ملا اور بہت سے ساز و سنگیت ہوئے (3) ساچا نام ۔ سچا صدیوی نام سچ حق و حقیقت ۔ ادھارو۔ آسرا ہے ۔ بھکھا۔ خواہشات کی بھوک ۔ گوائیاں۔ دور کیں۔ سانت ۔ سکون۔ اچھا ۔ خواہشات ۔ سبھ پجائیاں ۔ پوری کیں۔ سانت ۔ سکون۔ اچھا ۔ خواہشات ۔ سبھ پجائیاں ۔ پوری کیں۔ وٹہو ۔ اوپروں ۔ وڈیائیاں ۔ عظمتیں۔ سنتہو۔ روحانی رہبرو ۔ سبد دھر ہو پیارو۔ کلام سے محبت کرو۔ ساچا نام ۔ سچے صدیوی نام ۔ سچ ۔ حق و حقیقت ۔ ادھار۔ آسرا لو ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے صدیوی آقا وہ کونسی شے ہے جو تیرے گھر نہیں۔ تیرے گھر میں ہر شے موجود ہے مگر جسے تو دیتا ہے وہی پاتا ہے ۔ ہمیشہ تیری حمدوثناہ کرتا اور الہٰی نام دلمیں بساتا ہے ۔ سچ و حقیقت دل میں بس گئی ان کے ذہن میں سنگیت ہونے لگتے ہیں روحانی مراد اُن کے دل میں روحانی جوش و خروش رہتا ہے ۔ نانک کہتا ہے ۔ اے خدا کونسی چیز ہے جو تیرے پاس نہیں (3) سچا صدیوی الہٰی نام سچ حق وحقیقت میری زندگی کے لئے ایک آسرا ہے ۔ اسی ساچے نام کی وجہ سے میری دنیاوی دولت کی بھوک مٹ گئی ۔ اسی وجہ سے دل میں سکون اور آرام محسوس کیا ہے اور تمام خواہشات پوری ہوگئیں ہیں ۔ قربان ہوں اُس مرشد پر جس میں اتنی عظمتیں اور خوبیاں ہیں۔ ۔ نانک کہتا ہے کہ انسانوں روحانی رہبر سنتہوں کلام مرشد سے پیار کرؤ اور سچے صدیوی الہٰی نام سچ حق و حقیقت کو اپنی زندگی کا آسرا بناؤ۔

ۄاجےپنّچسبدتِتُگھرِسبھاگےَ॥
گھرِسبھاگےَسبدۄاجےکلاجِتُگھرِدھاریِیا॥
پنّچدوُتتُدھُۄسِکیِتےکالُکنّٹکُمارِیا॥
دھُرِکرمِپائِیاتُدھُجِنکءُسِنامِہرِکےَلاگے॥
کہےَنانکُتہسُکھُہویاتِتُگھرِانہدۄاجے॥੫॥
لفظی معنی:
پنچ سبد ۔ پانچ قسم کی سروں کی آوازیں۔ سبھاگے ۔ بلند قسمت ۔ تت۔ وہ ۔ کلا۔ طاقت۔ جت ۔ جس ۔ دھاریا۔ پائی۔ پنچ ۔ دوت۔ پانچ دشمن۔ احساسات بد۔ وس۔ زہر ضبط۔ کال کنٹک ماریا۔ روحانی واخلاقی موت کا کانٹا دور کیا۔ دھر ۔ کرم ۔ خدا کی کرم و عنایت ۔ مہربانی ۔ تدھ جن کو۔ جن کے اوپر ۔ سے ۔ وہ نام ہر کے لاگے ۔ وہی الہٰی نام سے اپنا رشتہ بناتے ہیں۔ تیہہ۔ انہیں۔ گھر ۔ انحد باجے ۔ ان کے دل میں لگاتار خوشی کے شادیانے ہوتے ہیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ انسانی بلا حرمت و حشمت بے وقار جسم بغیر سچی حقیقی محبت و لگن کے بغیر بیچارگی کی صورت و حالا ت میں کیا کرنے کی توفیق رکھتا ہے ۔ اے خدا تیرے بغیر اے مالک علام کسی میں توفیق نہیں اے مالک علام کرم فمرائی کیجیئے ۔ اس کے علاوہ اور کوئی ٹھکانہ نہیں تیری ہی کرم و عنایت سے کلام اپنا کر درستی یکجاسکتی ہے ۔ نانک کا فرمان ہے کہ الہٰی محبت میں مصروفیت کے بغیر کیا چارہ یا علاج ہو سکتا ہے ۔

ساچیِلِۄےَبِنُدیہنِمانھیِ॥
دیہنِمانھیِلِۄےَباجھہُکِیاکرےۄیچاریِیا॥
تُدھُباجھُسمرتھکوءِناہیِک٘رِپاکرِبنۄاریِیا॥
ایسنءُہورُتھاءُناہیِسبدِلاگِسۄاریِیا॥
کہےَنانکُلِۄےَباجھہُکِیاکرےۄیچاریِیا॥੬॥
لفظی معنی:
ساچی لوئے بن ۔ سچی صدیوی محبت کے بغیر۔ نمانی ۔ بے وقار ۔ بے قدر و قیمت۔ بیچاریا ۔ جس کا کوئی علاج اور قدروقیمت نہ ہو ۔ سمرتھ ۔ با قوت ۔ بنواریا۔ جنگلات کے مالک خدا۔ تھاؤ۔ ٹھکانہ نہیں۔ سبد لاگ۔ سبق پر عمل کرکے ۔ سواریا۔ اس جسم کے کردار کی درستی ہو سکتی ہے ۔ کہے نانک۔ نانک کہتا ہے ۔ لوے باجہو ۔ لگن اور محبت کے بغیر ۔ بیچاریا۔ کیا چارا یا علاج ہو سکتا ہے ۔

آننّدُآننّدُسبھُکوکہےَآننّدُگُروُتےجانھِیا॥
جانھِیاآننّدُسداگُرتےک٘رِپاکرےپِیارِیا॥
کرِکِرپاکِلۄِکھکٹےگِیانانّجنُسارِیا॥
انّدرہُجِنکاموہُتُٹاتِنکاسبدُسچےَسۄارِیا॥
کہےَنانکُایہُاننّدُہےَآننّدُگُرتےجانھِیا॥੭॥
لفظی معنی:
جانیا۔ سمجھیا۔ کل وکھ ۔ گناہ ۔ برائیاں۔ گیان انجن ۔ علم کا سرما۔ ساریا۔ دیا۔ پہنچائیا یا ڈالا۔ ایس نو۔ اسکو ۔ تھاؤ۔ ٹھکانہ ۔ سبد لاگ۔ کلام کی محبت سے ۔ سواریا۔ اس کی درستی ہو سکتی ہے ۔ لوے باجہو۔ بغیر محبت کے کیا کرے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کہنے کو تو سبھ ہی انند انند کہتے ہیں مگر انند کا مدعا و مقصد مرشد سمجھاتا ہے ۔ اے پیارے حقیقی انند کی سمجھ مرشد سے آتی ہے ۔ جس کی برائیاں اور بدکاریاں دور کرکے علم و دانش کا سرمہ مراد حقیقت و رُوحانیت و حَقیقی اخلاق کا سُرمہ اُسکی آنکھون مراد اُسکے ذہن میں نشین ہو پڑجاتا ہے ۔ رُروحانی زندگی کی سمجھ آجاتی ہے ۔ جن کے دل و دماغ سےد نیاوی دولت کی محبت ختم ہوجاتے ہیں۔ خدا اُن کے کلام کو درست بنا دیتا ہے ۔ نانک کہتا ہے ۔ کہ انند یہ ہے اور انند کی سمجھ مرشد دیتا ہے ۔

باباجِسُتوُدیہِسوئیِجنُپاۄےَ॥
پاۄےَتسوجنُدیہِجِسنوہورِکِیاکرہِۄیچارِیا॥
اِکِبھرمِبھوُلےپھِرہِدہدِسِاِکِنامِلاگِسۄارِیا॥
گُرپرسادیِمنُبھئِیانِرملُجِنابھانھابھاۄۓ॥
کہےَنانکُجِسُدیہِپِیارےسوئیِجنُپاۄۓ॥੮॥
لفظی معنی:
سوئی۔ وہی ۔ سوجن ویہہ۔ وہی پاتا ہے جسے دیتا ہے ۔ ہور ۔ دوسرا ۔ بیچاریا۔ مسکین ۔ عاجز۔ لاچار۔ بھرم۔ وہم گمان ۔ شک و شبہات ۔ بھلوے ۔ گمراہ ۔ دہدس۔ ہر طرف ۔ نام لاگ۔ سچ و حقیقت اپنا کر ۔ سواریا۔ اپنے کردار و اعمال کو درست کر لیتا ہے ۔ گر پر سادی ۔ رحمت مرشد سے ۔ نرمل۔ پاک ۔ بھانا بھاوے ۔ رضائے الہٰی جن کو پیاری لگتی ہے ۔
ترجمہ
اے خدا جسے تو روحانی انند کی نعمت عنایت کرتا ہے وہی پاتا ہے دوسروں کی اس بابت بیش یا چارہ نہیں چلتا ۔ ایک وہم وگمان و شک و شبہات میں ہر طرف بھٹکتے پھرتے ہیں اور ایک الہٰی نام سچ و حق و حقیقت اپنا کر اپنی زندگی کے چلن اور راہیں استوار کر لیتے ہیں رحمت مرشد سے د ل و ذہن پاک ہوجاتا ہے اور انہیں الہٰی رضا سے محبت ہو جاتی ہے ۔ اے نانک بتادے جس پیارے کو دیتا ہے وہی پاتا ہے ۔

آۄہُسنّتپِیارِہواکتھکیِکرہکہانھیِ॥
کرہکہانھیِاکتھکیریِکِتُدُیارےَپائیِئےَ॥
تنُمنُدھنُسبھُسئُپِگُرکءُہُکمِمنّنِئےَپائیِئےَ॥
ہُکمُمنّنِہُگُروُکیراگاۄہُسچیِبانھیِ॥
کہےَنانکُسُنھہُسنّتہُکتھِہُاکتھکہانھیِ॥੯॥
لفظی معنی:
اکتھ ۔ نا قابل بیان۔ کت دوآرے ۔ کس کے در سے ۔ تن من دھن ۔ ذہن و جسم اور دولت ۔ سونپ ۔ حوالے کرکے ۔ حکم لینے پاییئے ۔ فرمانبردار ہوکر ۔ گاہو سچی بانی ۔ اسکا سچا کلام گاو۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے روحانی رہبر سنتہو آو اُس ناقابل بیان کو بیان کریں اور یہ سوچیں سمجھیں کہ اُسے کس طریقے سے کسی در سے اُسکا ملاپ و وصل حاصل ہو سکتا ہے ۔ دل و جان اور سرمایہ مرشد کے حوالے کرکے اُسک فرمان کی فرمانبرداری کرنے سے ملاپ و وصل نصیب ہوتا ہے ۔ فرمانبرداری کرؤ اور سچا کلام گاؤ ۔ نانک بتادے اُس ناقابل بیان خدا کی کہانی کہو اور سنہو ۔

اےمنچنّچلاچتُرائیِکِنےَنپائِیا॥
چتُرائیِنپائِیاکِنےَتوُسُنھِمنّنمیرِیا॥
ایہمائِیاموہنھیِجِنِایتُبھرمِبھُلائِیا॥
مائِیاتموہنھیِتِنےَکیِتیِجِنِٹھگئُلیِپائیِیا॥
کُربانھُکیِتاتِسےَۄِٹہُجِنِموہُمیِٹھالائِیا॥
کہےَنانکُمنچنّچلچتُرائیِکِنےَنپائِیا॥੧੦॥
لفظی معنی:
چترائی ۔ چالاکی ۔ ہوشیاری ۔ چنچلا ۔ چالاک ۔ ہوشیار۔ سوہنی ۔ دلربا۔ پیاری ۔ بھرم۔ وہم گمان ۔ شک و شبہات ۔ بھلائیا۔ گمراہ کیا۔ ٹھگولی ۔ وہ دوائی یا بوٹی جسے سنگھا کر دہوکا باز مسافروں کو لوٹتے ہیں۔ وٹہو۔ اُس پر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے چالا دہوکے باز دل دہوکے بازی اور چالاکی سے الہٰی وصل اور آنند مراد روھانی اور ذہنی سکون حاصل نہیں ہو سکتا اے دل دانمشندی اور دہوکا بازی سے نصیب نہیں ہوتا۔ یہ بات سن اور ذہن کراے میرےد ل ۔یہ دنیاوی دولت اُسی نے پیدا کی ہے اُس نے یہ وہم گمان پیدا کی ہے محبت اچھی چیز ہے اسطرح سے گمراہ کیا ہے ۔ جس نے یہ وہم و گمان پیدا کیا ہے ۔ اُسی نے گمراہ کرنے والی یہ بوٹی یا دو ایجاد کی ہے ۔ قربا ن ہوں اُس خدا پر جس نے اس دنیاوی دولت سے محبت پیدا کی ہے ۔ نانک بیان کرتا ہے ۔ اے چالا ک دل چالاکی اور دہوکے سے الہٰی وصل و روحانی وذہنی سکون حاصل نہیں ہو سکتا۔

اےمنپِیارِیاتوُسداسچُسمالے॥
ایہُکُٹنّبُتوُجِدیکھداچلےَناہیِتیرےَنالے॥
ساتھِتیرےَچلےَناہیِتِسُنالِکِءُچِتُلائیِئےَ॥
ایَساکنّمُموُلےنکیِچےَجِتُانّتِپچھوتائیِئےَ॥
ستِگُروُکااُپدیسُسُنھِتوُہوۄےَتیرےَنالے॥
کہےَنانکُمنپِیارےتوُسداسچُسمالے॥੧੧॥
اگماگوچراتیراانّتُنپائِیا॥
انّتونپائِیاکِنےَتیراآپنھاآپُتوُجانھہے॥
جیِءجنّتسبھِکھیلُتیراکِیاکوآکھِۄکھانھۓ॥
آکھہِتۄیکھہِسبھُتوُہےَجِنِجگتُاُپائِیا॥
کہےَنانکُتوُسدااگنّمُہےَتیراانّتُنپائِیا॥੧੨॥
لفظی معنی:
سچ سبھاے ۔ سچے سچ صدیوی خدا کو یاد کر ۔ کٹنب ۔ اہل و عیال ۔ قبیلہ پروار ۔ نالے ۔ ساتھ ۔ بوقت موت با آخرت ۔ ساتھ نہیں جاتا ۔ چت لاییئے ۔ محبت کریں۔ مولے ۔ بالکل۔ کیجے ۔ کرؤ۔ جت ۔ انت پچھوتاییئے ۔ جس سے بوقت اخرت پچتانا پڑے ۔ اُپدیس ۔ نصیحت ۔ واعظ ۔(11) اگم اگوچر ۔ انسانی عقل و ہوش سے بلند نا قابل بیان۔ انت۔ آخر۔ اپنا آپ تو جانہے ۔ اے خدا تجھے اپنے متعلق اپنی صفات نیک و بد اور قوت و وسعت کے متعلق تو ہی جانتا ہے ۔ جیئہ جنت ۔ قائنات و مخلوقات و جاندار ۔ کیا کو آکھ دکھانیئے ۔ کوئی کیا کہے اور بیان کرے ۔ آکھیہہ تے ۔ دیکھہہ۔ جو کہتا ہے اور دیکھتا ہے و ہ تو ہی ہے ۔ جن جگت اپائیا۔ جس نے عالم پیدا کیا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانی عقل و ہوش سے بروں و بعید خدا کو کوئی تیرا آخر یا کنارہ پا نہیں سکا۔ اپنے متعلق اپنی وسعت و شمار کے بارے میں تو ہی بہتر جانتا ہے یہ قائنات و جاندار تیرا ایک کھیل تماشہ ہے کوئی دوسرا اس کے بارے کیا کہہ سکتا ہے ۔ کہنے والا اور دیکھنے والا بھی تو ہی ہے ۔ جس نے یہ عالم پیدا کی ہے ۔ نانک بیان کرتا ہے کہ خدا انسانی رسائی سے بلند و بالا ہے اے خدا وہ تیرا آخر پانے سے قاصر ہے ۔ اے پیارے دل ہمیش سچے سچ صدیوی خدا کو سنبھال رکھ مراد دل میں بسا جو یہ پریوار قبیلہ اور خاندان جس پر تیری نظر ہے تیرے ساتھ جانے والا اور ساتھ دینے والا نہیں اس لئے اس سے کیوں دلی محبت پیدا کرتا ہے ۔ ایسا کام بالکل نہیں کرنا چاہیے جس سے بوقت آخرت پچھتا نا پڑے ۔ سچے مرشد کی نصیحت واعظ و سبق سن جو تیرا ساتھ دیگا۔ نانک کہنا ہے ۔ اے پیارے د ل صدیوی سچ مراد خدا دلمیں بسا۔

سُرِنرمُنِجنانّم٘رِتُکھوجدےسُانّم٘رِتُگُرتےپائِیا॥
پائِیاانّم٘رِتُگُرِک٘رِپاکیِنیِسچامنِۄسائِیا॥
جیِءجنّتسبھِتُدھُاُپاۓاِکِۄیکھِپرسنھِآئِیا॥
لبُلوبھُاہنّکارُچوُکاستِگُروُبھلابھائِیا॥
کہےَنانکُجِسنوآپِتُٹھاتِنِانّم٘رِتُگُرتےپائِیا॥੧੩॥
لفظی معنی:
سُر۔ دیوتے ۔ فرشتے ۔ نر ۔ا نسان ۔ من ۔ عارفان۔ جن ۔ خدمتگاران ۔ کھوجدے ۔ ڈہونڈتے ۔ انمرت ۔ آب حیات۔ ایسا پانی جس کے پینے سے زندگی روحانی واخلاقی طور پر بلند ہو جاتی ہے ۔ گر مرشد۔ کرپا۔ کرم و عنایت ۔ سچا ۔ صدیوی سچا خدا۔ لبھ ۔ لالچ۔ موہ ۔ دنیاوی دولت کی محبت ۔ چوکا ۔ مٹائیا۔ اہنکار۔ غرور۔ تکبر۔ اک دیکھ پرسن آئیا۔ ایک دیدار کرکے چھوتے ہیں۔ تٹھا۔ مہربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
سُر ۔ دیوتے فرشتے نر انسان اور عارف جسے ڈنڈتے پھرتے ہیں جستجو میں ہیں وہ آب حیات مراد روحانی و ذہنی سکون اور وہ مرشد سے حاصل ہوا۔ اور رحمت مرشد سے دل میں بسائیا ۔ اے خدا ساری قائنات اور جاندار تیرے ہی پیدا کیے ہوے ہیں اور بہت سے تیرا دیدار پاکر تیری چھوہ حاصل کرتے ہیں ۔ سچے مرشد سے محبت کرتے ہیں اور اپنا لالچ اور غرور مٹا دیتے ہیں۔ نانک کہتا ہے جس پر خدا خود مہربان ہوتا ہے اُسےا لہٰی نام کا آب حیات مرشد سے دلواتا ہے ۔

بھگتاکیِچالنِرالیِ॥
چالانِرالیِبھگتاہکیریِبِکھممارگِچلنھا॥
لبُلوبھُاہنّکارُتجِت٘رِسنابہُتُناہیِبولنھا॥
کھنّنِئہُتِکھیِۄالہُنِکیِایتُمارگِجانھا॥
گُرپرسادیِجِنیِآپُتجِیاہرِۄاسناسمانھیِ॥
کہےَنانکُچالبھگتاجُگہُجُگُنِرالیِ॥੧੪॥
لفظی معنی:
نرالی ۔ انوکھی ۔ علیحدہ ۔ وکھم مارگ۔ دشوار راستہ ۔ لب ۔ لوبھ ۔ا ہنکار تج ۔ بہتانا ہی بولنا۔ لالچ غرور چھوڑ کر ۔ زیادہ باتیں نہیں کریت ۔ کھنہو۔ شمشیر یا کھنڈے سے تیز۔ بالہو بال سے ۔ نکی ۔ باریک ۔ ایت مارگ۔ اس راسے پر ۔ آپ تجیا ۔ خودی خوئشتا ۔ اپنا پن ۔ ر داسنا۔ الہٰی ایمان و یقین ۔ سمانی ۔ بسنا۔
ترجمہ معہ تشریح: ۔
خادمان خدا کی طرز زندگی عام لوگوں سے علیحدہ اور انوکھی ہوتی ہے ۔ جو نہایت دشوار ہے ۔ لالچ ۔ غرور تکبر ۔ چھوڑ کر اور خواہشات ختم کرکے کم باتیں کرنا ہے ۔ اس راستے پر چلناتلوار کید ھار سے تیز بال سے باریک راستے پر چلنا ہے ۔ رحمت مرشد سے جس نے خودی مٹا دی اُس کی الہٰی یادوریاض میں محویت سے دنیاوی دولت کی محبت ختم ہو جاتی ہے ۔ نانک کہتا ہے ۔ کہ ہر زمانے کے دور میں خادمان خدا کی طرز زندگی جس میں وہ گذارتے ہیں عام لوگوں سے علیحدہ ہوتی ہے ۔
مراد:
روحانی وذہنی سکون پانے والوں کی طرز زندگی دنیا کے لوگوں سے علیحدہ اور نرالی ہوتی ہے ۔ وہ شہرت نہیں چاہتے اور براہوں سے بچتے ہیں مگر اس طرح سے زندگی گذارنا نہایت دشوار ہے ۔ رحمت مرشد سے ہی خودی مٹائی جا سکتی ہے ۔

جِءُتوُچلائِہِتِۄچلہسُیامیِہورُکِیاجانھاگُنھتیرے॥
جِۄتوُچلائِہِتِۄےَچلہجِنامارگِپاۄہے॥
کرِکِرپاجِننامِلائِہِسِہرِہرِسدادھِیاۄہے॥
جِسنوکتھاسُنھائِہِآپنھیِسِگُردُیارےَسُکھُپاۄہے॥
کہےَنانکُسچےساہِبجِءُبھاۄےَتِۄےَچلاۄہے॥੧੫॥
لفظی معنی:
جیؤ ۔ جیسے ۔ گن ۔ وصف۔ جنا۔ جن میں ۔ مارگ۔ راستے ۔ کرپا ۔ مہربانی ۔ نام لائے ۔ سچ و حقیقت کا درس دیکر۔ اس میں لگائے ۔سے ۔ وہ ۔ ہر ہر سدادھیا وہے ۔ ہمیشہ خدا میں دھیان لگاتے ہیں۔ کتھا ۔ کہانی ۔ گردو آرے ۔ در مرشد۔ مرشد کے ذریعے ۔ جیو بھاوے ۔ جیسے ہے رضا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا جس طرز زندگی پر تو چلاتا ہے انسان اُسی راہ پر چلنے کے لئے مجبور ہے چلتا ہے ۔ تیرے دوسرے اوصاف میں ہیں سمجھتا۔ اے خدا جن میں تو اپنی کرم عنایت سے الہٰی نام سچ و حقیقت میں لگاتاہے وہ ہر وقت یاد خدا مین محو رہتے ہیں۔ جسے تو اپنی کہانی ( سناتے ہیں ) سناتا ہے وہ در مرشد پر روحانی سکون پاتے ہیں۔ نانک کہتا ہے اے صدیوی سچے آقا جیسے ہے تیری رضا اسی طرح سے تو چلاتاہے ۔
مراد:
روھانی سکون کی نعمت کدا کے اپنے زیر اختیار ہے ۔ جسے اپنی کرم و عنایت سے اپنے نام سچ و حقیقت کی طرف رحجان کراتا ہے ۔ وہ مرشد کے در پر پہنچ کر روحانی سکون پاتا ہے ۔ الہٰی نام کی یاد ور یاض کی برکت سے ۔

ایہُسوہِلاسبدُسُہاۄا॥
سبدوسُہاۄاسداسوہِلاستِگُروُسُنھائِیا॥
ایہُتِنکےَمنّنِۄسِیاجِندھُرہُلِکھِیاآئِیا॥
اِکِپھِرہِگھنیرےکرہِگلاگلیِکِنےَنپائِیا॥
کہےَنانکُسبدُسوہِلاستِگُروُسُنھائِیا॥੧੬॥
لفظی معنی:
سوہلا۔ خوشی کا راگ ۔ نغمہ ۔ سبد ۔ کلام۔ سہاوا۔ اچھا۔ ایہہ۔ یہ ۔ تن کے ۔ ان کے ۔ دھر ہو لکھیا آئیا۔ جن کے ذمہ بار گاہ الہٰی کی طرف سے تحریر ہے ۔ گھنیرے ۔ زیادہ ۔ گلی ۔ زبانی باتوں سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ سہاونا کلام خوشیوں بھرا ایک نغمہ ہے ۔ جو سچا مرشد سناتا ہے ۔ یہ اُن کے دل میں بستا ہے جن کے دل میں بارگاہ الہٰی کی طرف سے تحریر ہوتا ہے ۔ ایک دوڑے پھرتے ہیں باتیں بناتے ہیں ۔ مگر باتیں بنانے سے ( یہ روحانی وزہنی سکون) نہیں ملتا ۔ نانک کہتا ہے یہ روحانی کلام جو روحانی سکون دیتا ہے ۔ سچا مرشد سناتا ہے ۔
مراد:
کلام مرشد ہی روحانی سکون حاصل کرنے کے لئے وسیلہ ہے ۔

پۄِتُہوۓسےجناجِنیِہرِدھِیائِیا॥
ہرِدھِیائِیاپۄِتُہوۓگُرمُکھِجِنیِدھِیائِیا॥
پۄِتُماتاپِتاکُٹنّبسہِتسِءُپۄِتُسنّگتِسبائیِیا॥
کہدےپۄِتُسُنھدےپۄِتُسےپۄِتُجِنیِمنّنِۄسائِیا॥
کہےَنانکُسےپۄِتُجِنیِگُرمُکھِہرِہرِدھِیائِیا॥੧੭॥
لفظی معنی:
پوت۔ پاک ۔ سے جنا۔ وہ شخص ۔ جنی ہر دھائیا ۔ جنہوں نے خدا میں دھیان لگائیا۔ گورمکھ مرید مرشد ہوکر ۔ کٹنب ۔ قبیلہ ۔ خاندان ۔ پریوار ۔ سیؤ۔ معہ ۔ سنگیت سبائیا۔ سارے ساتھی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جنہوں نے لگائیا دھیان خدا میں پاک ہوئے ۔ پاک وہ ہوگئے ۔ وہ جنہوں نے دھیان لگائیا۔ اُن کے ماں با پ غرض یہ کہ سارا خاندان اور ساتھی بھی پاک ہوگئے کہنے والے سننے والے سارے پاک ہوگئے جنہوں نے دل میں بسائیا ۔ کہتا ہے نانک وہ بھی پاک ہوگئے جنہوں نے مرشد کے وسیلے سے دلمیں بسائیا ۔

کرمیِسہجُناوُپجےَۄِنھُسہجےَسہسانجاءِ॥
نہجاءِسہساکِتےَسنّجمِرہےکرمکماۓ॥
سہسےَجیِءُملیِنھُہےَکِتُسنّجمِدھوتاجاۓ॥
منّنُدھوۄہُسبدِلاگہُہرِسِءُرہہُچِتُلاءِ॥
کہےَنانکُگُرپرسادیِسہجُاُپجےَاِہُسہسااِۄجاءِ॥੧੮॥
لفظی معنی:
کرمی ۔ اعمال سے ۔ سہج نہ اُپجے ۔ روحانی سکون پیدا نہیں ہوتا۔ بن سہجے ۔ روحانی و ذہنی سکون کے بغیر ۔ سہسا ۔ فکر مندی ۔ خوف۔ سنجم) سنجم۔ پرہیز گاری ۔ ضبط۔ رہے کرم کمائے ۔ اعمال کرتے کرتے ماند ہوگئے ۔ ملین ۔ میلا۔ ناپاک۔ کت ۔ کس ۔ دہوتا جاے ۔ ناپاکیزگی دور ہو۔ من دہووہو۔ ذہن اور سوچ پاک بناؤ۔ سبد لاگہو۔ کلام پر عمل کرؤ۔ ہر سیو چت لاؤ۔ خدا میں دل لگاؤ ۔ گر پر سادی ۔ رحمت مرشد سے روحانی وذہنی سکون پیدا ہوتا ہے ۔ ایہہ سہسا ۔ اس طرح سے فکر مندی ۔ جائے ۔ ختم ہوتی ہے ۔
ترجمہ
اعمال سے روحانی وذہنی سکون حاصل نہیں ہوتا اور روحانی و ذہنی سکون کے بغیر فکر مندی اور تشویش دور نہیں ہوتی ۔ روحانی سکون بیرونی مذہبی عقائد پر عمل کرنے سے حاصل نہیں ہوتا۔ فکر مندی اور تشویش ناپاک عمل و فعل ہے اسے کس طریقے سے پاک بنائیا جائے ۔ ذہن دہوؤ اور کلام پر عمل کرؤ اور خدا سے محبت کرؤ ۔ نانک کہتا ہے رحمت مرشد سے ذہنی و روحانی سکون ملتا ہے اور اسطرح سے فکر و تشویش دور ہوتی ہے ۔
مراد :
دنیاوی دولت کے اعمال سے فکر و تشویش پیدا ہوتی ہے ۔ اور اس فکر مندی اور تشویش کی دائی ہے ذہنی و روحانی سکون اور روحانی سکون رحمت مرشد الہٰی یاد اور سبق مرشد پر عمل کرنے سے حاصل ہوتا ہے ۔

جیِئہُمیَلےباہرہُنِرمل॥
باہرہُنِرملجیِئہُتمیَلےتِنیِجنمُجوُئےَہارِیا॥
ایہتِسناۄڈاروگُلگامرنھُمنہُۄِسارِیا॥
ۄیدامہِنامُاُتمُسوسُنھہِناہیِپھِرہِجِءُبیتالِیا॥
کہےَنانکُجِنسچُتجِیاکوُڑےلاگےتِنیِجنمُجوُئےَہارِیا॥੧੯॥
لفظی معنی:
جیئو ۔ ذہنی طور پر ۔ قلب ۔ دل ۔ میلے ۔ ناپاک ۔ باہرونر مل ۔ بیرونی پاکیزگی ۔ جنم۔ پیدا ہوتا ہے ۔ زندگی ۔جوئے ہاریا۔ زندگی بیفائدہ گذاردی زندگی کا مقصد حاصل نہ کر سکے ۔ تسنا۔ خواہشا ت کی پیاس۔ روگ۔ بیماری ۔ مرن ۔ موت ۔ وساریا۔ بھلا دیا۔ نام اُتم ۔ سچ و حقیقت کو عظمت حاصل ہے ۔ بیتالیا۔ بھوت۔ بدروح۔ سچ تجیا۔ اصلیت چھوڑ کر ۔ کوڑا لاگے ۔ جھوٹ اپنائیا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بیرونی طور پر مذہبی عقائد کے مطابق اعمال و پوش ہے ۔ مگر دل میں برائیاں اور بدکاریاں ہیں تو سمجھو زندگی جوئے کے کھیل میں ہار گئے ۔ انسان کو خواہشات کی بھاری بیماری لگی ہوئی ہے اور موت کو دل سے بھلا رکھا ہے ۔ ہندوں کے کتاب ویدوں میں الہٰی نام سچ و حقیقت اور اصلیت کو بلند رُتبہ دیا گیا ہے ۔ اُسے سنتے نہیں غور نہیں بد روحوں کی مانند بھٹکتے پھرتے ہیں۔ نانک کہتا ہے ۔ جھوٹ اپنانے سے زندگی بیکار جوئے میں ہار جانے کے مترادف ہے ۔ سچ حق و حقیقت واصلیت چھوڑ کر ۔
مراد:
صرف بیرونی مذہبی عقاید اور اعمال سے برائیوں بد اعمالیوں کی ناپاکیزگی دل میں اور زہن میں موجود رہتی ہے دل سے دنیاوی دولت کی محبت دور نہیں ہوتی جہاں قلب و ذہن بیماری ہے وہاں روحای و ذہنی سکون کہاں ۔ لہذا سچ و حقیقت الہٰی نام ذہنی فکر مندی و تشویش کے لئے واحد دوائی اور وسیلہ ہے ۔ اسی سے روحانی سکون حاصل ہوتا ہے ۔

جیِئہُنِرملباہرہُنِرمل॥
باہرہُتنِرملجیِئہُنِرملستِگُرتےکرنھیِکمانھیِ॥
کوُڑکیِسوءِپہُچےَناہیِمنساسچِسمانھیِ॥
جنمُرتنُجِنیِکھٹِیابھلےسےۄنھجارے॥
کہےَنانکُجِنمنّنُنِرملُسدارہہِگُرنالے॥੨੦॥
لفظی معنی:
سوئے ۔ خبر ۔ منسا۔ ارادہ ۔ سچ سمانی ۔ سچ و حقیقت خدا میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔ جنم رتن ۔ زندگی کا قیمتی ہیرا۔ ونجارے ۔ سوداگر ۔ بیو پاری ۔ گھٹیا ۔ کمائیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
وہ انسان اندرونی و بیرونی طور پر پاک ہوتے ہیں جو سچے مرشد کے بتائے ہوئے راستے یا ہدایات پر اپنا اخلاق یا چال چلن بناتے ہیں مراد جہاں دل و ذہن پاک ہو تا ہے وہا لوگوں سے بھی حسن سلوک سے پیش آتے ہیں۔ جھوٹ اور دنیاوی دولت کی خبر تک اُن کے ذہن میں نہیں بستی ۔ اُن کے ارادے سچ و حقیقت میں محو ومجذوب ہوجاتے ہیں۔ جنہوں نے ایسی قیمتی زندگی کا ہیرا پالیا وہ نیک سوداگر ہیں۔ جنکا دل و ذہن پاک ہوجاتا ہے ۔ اے نانک وہ ہمیشہ مرشد کے ہوجاتے ہیں۔
مراد:
انسان دنیا میں ذہنی سکون چاہتا ہے جو انسان سبق مرشد پر عمل کرتا ہے ۔ دنیاوی دولت کی محبت ختم ہوجاتی ہے ۔ اس کے ذہن میں برائیوں و بدکاریوں کا خیال تک پیدانہیں ہوتا ۔ اور لوگوں سے بھی خوش اخلاقی سے پیش آتا ہے ۔ اُ سکی زندگی کامیاب سمجھو ۔

جےکوسِکھُگُروُسیتیِسنمُکھُہوۄےَ॥
ہوۄےَتسنمُکھُسِکھُکوئیِجیِئہُرہےَگُرنالے॥
گُرکےچرنہِردےَدھِیاۓانّترآتمےَسمالے॥
آپُچھڈِسدارہےَپرنھےَگُربِنُاۄرُنجانھےَکوۓ॥
کہےَنانکُسُنھہُسنّتہُسوسِکھُسنمُکھُہوۓ॥੨੧॥
لفظی معنی:
منمکھ ۔ حاضر رہن والا ۔ حضوریا ۔ جیئہ ۔ دل سے ۔ انتر آتما ۔ سماے ۔ ہمیشہ دل میں یا د رکھے ۔ آپ چھود ۔ خودی ختم کرکے ۔ پرے ۔ آسرے ۔ اور نہ جانے کوئے ۔ کسی کا محتاج نہ ہو
ترجمہ معہ تشریح:
اگر کوئی مرید مرشد کے ساہمنے حاضر رہے ۔ اور دل و جان سے اُسکا ساتھ دے اور مرشد پر ایمان لائے اور مستفید ہو اور ذہن میں بسائے ۔ خودی ختم کرکے مرشد کو اپنا آسرا بنائے اور مرشد کے بغیر کسی دوسرے کو روحانی سکون حاصل کرنے کا وسیلہ نہ بنائے ۔ نانک کہتا ہے ۔ کہ اے رہبر روحانیت سنتہو وہی مرید مرشد معقد ہو سکتا ہے جو خودی مٹا کر جو ہمیشہ مرشد کو آسرا بنائے ۔
مراد:
وہی انسان خوشباش ہو سکتا ہے وہ روحانی سکون کا لطف لے سکتا ہے جو سچے دل سے مرید مرشد ہو اور خودی مٹا کر مرشد کو ہی اپنا سہارا بنائے ۔

جےکوگُرتےۄیمُکھُہوۄےَبِنُستِگُرمُکتِنپاۄےَ॥
پاۄےَمُکتِنہورتھےَکوئیِپُچھہُبِبیکیِیاجاۓ॥
انیکجوُنیِبھرمِآۄےَۄِنھُستِگُرمُکتِنپاۓ॥
پھِرِمُکتِپاۓلاگِچرنھیِستِگُروُسبدُسُنھاۓ॥
کہےَنانکُۄیِچارِدیکھہُۄِنھُستِگُرمُکتِنپاۓ॥੨੨॥
لفظی معنی:
بیمکھ ۔ ناراض ۔ مکت۔ نجات۔ آزادی۔ ہو رتھے ۔ کسی دوسیر جگہ سے ۔ بیکیاں۔ سمجھداروں جو ہر بات کی بابت تحقیق کرتے ہیں ۔ اصلیت کو سمجھنے کے لئے ۔ بھرم۔ بھٹکن کر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اگر کوئی مرشد سے منکر ہوجائے تو ستگر یا سچے مرشد کے بغیر دنیاوی دولت کی محبت اور وہم و گمان سے نجات نہیں ہو سکتی دوسرا کوئی ایسا مقام نہیں جس سے نجات حاصل ہو سکے ۔ بیشک دانشمندوں تحقیق کرنے والوں سے پوچھ لو سچے مرشد کے بغیر نجات حاصل نہیں ہو سکتی ۔ خوہا کتنی دیر بھٹکتے رہو سچے مرشد کے بغیر نجات حاصل نہیں ہو سکتی ۔ پھر مرید مرشد ہوکر ہی مرشد کے واعظ و سبق سے ہی نجات حاصل ہوتی ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ سچے مرشد کے بغیر نجات نہیں ۔

آۄہُسِکھستِگُروُکےپِیارِہوگاۄہُسچیِبانھیِ॥
بانھیِتگاۄہُگُروُکیریِبانھیِیاسِرِبانھیِ॥
جِنکءُندرِکرمُہوۄےَہِردےَتِناسمانھیِ॥
پیِۄہُانّم٘رِتُسدارہہُہرِرنّگِجپِہُسارِگپانھیِ॥
کہےَنانکُسداگاۄہُایہسچیِبانھیِ॥੨੩॥
لفظی معنی:
سچی جانی ۔ سچ و حقیقت پر مبنی کلام۔ بانیا سربانی ۔ بلند عظمت کلام ۔ ندر کرم ۔ نگاہ شفقت و عنایت ۔ ہر دے تنا ۔ اُن کے دل میں۔ سمانی ۔ بستی ہے ۔ انمرت ۔ آبحیات۔ وہ پانی جس کے پینے سے انسانی زندگی خوش خلق روحانی واخلاقی ہو جاتی ہے ۔ ہر رنگ ۔ الہٰی عشق و محبت میں۔ سارنگ پانی ۔ الہٰی کلام سچی بانی ۔ صدیوی سچا کلام۔
ترجمہ
اے سچے مرشد کے پیارے مریدو آو صدیوی سچے خدا کے کلام گائیں جو سب کلاموں سے افضل کلام ہے ۔ جن پر الہٰی نگاہ شفقت ہے ان کے ہی دل میں بستا ہے یہ کلام نانک کہتا ہے ہمیشہ اس سچے صدیوی الہٰی کلام کو گاؤ آبحیات ہے یہ کلام ہے اسے نوش کیجیئے ہمیشہ خدا سے محبت کرؤ اور الہٰی کلام گاؤ۔

ستِگُروُبِناہورکچیِہےَبانھیِ॥
بانھیِتکچیِستِگُروُباجھہُہورکچیِبانھیِ॥
کہدےکچےسُنھدےکچےکچیِآکھِۄکھانھیِ॥
ہرِہرِنِتکرہِرسناکہِیاکچھوُنجانھیِ॥
چِتُجِنکاہِرِلئِیامائِیابولنِپۓرۄانھیِ॥
کہےَنانکُستِگُروُباجھہُہورکچیِبانھیِ॥੨੪॥
لفظی معنی:
ستگر بنا۔ سچے مرشد کے علاوہ ۔ دیگر ۔ دوسری ۔ بانی ۔ کلام۔ کچی ۔ کام۔ گھٹیا۔ کچے ۔ کم ہوشمند۔ ہر ہر تت کر لیہہ رسنا۔ ہر روز خدا خدا ۔ اللہ اللہ کہتے ہیں تاہم جو کہتے ہیں اُس سے بیخبر ہیں۔ جن کے دل دنیاوی دولت سے چرا لیا اپنی محبت کی گرفت میں لے لیا و ہ صرف زبای زبانی ہوتا ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ سچے مرشد کے بغیر ساری بای یا کلام روحانی لطف و سکون در کنار کرتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچے مرشد کے علاوہ دوسرے کلام معاون روحانی زندگی نہیں کچے اور خام ہیں ایسا کلام کہنے والے اور سننے والے بھی کام انسان نہیں ہو سکتے وہ اخلاق روحانیت کے منشا کے بر خلاف ہی بیان کرتے ہیں۔ گو وہ زبان سے خدا خدا کہتے ہیں ۔ مگر جو وہ کہتے ہیں اُس کے علم و سمجھ سے بیخبر ہوتے ہیں۔ جن کے دل کو دنیاوی دلوت کی محبت نےا پنی گرفت میں جکڑ لیا ہے وہ صرف زبان سے کہتے ہیں حقیقتاً نہیں۔ نانک کہتا ہے ۔ مرشد کی نصیحت واعظ کے خلاف انسان کو روحانی سکون کے لطف اور روحانی اور اخلاق سے درکنار کرکے دنیاوی دولت کی گرفت میں جکڑے رکھتی ہے ۔

گُرکاسبدُرتنّنُہےَہیِرےجِتُجڑاءُ॥
سبدُرتنُجِتُمنّنُلاگاایہُہویاسماءُ॥
سبدسیتیِمنُمِلِیاسچےَلائِیابھاءُ॥
آپےہیِرارتنُآپےجِسنودےءِبُجھاءِ॥
کہےَنانکُسبدُرتنُہےَہیِراجِتُجڑاءُ॥੨੫॥
لفظی معنی:
رتن۔ بیش قیمت نعمت۔ ہیرے جت جڑاؤ۔ جس طرح سے ۔ جڑاو جڑے ہوئے ہیرے ہوتے ہیں۔ جت من لاگا ۔ جس کے دل کو پسند آئیا۔ ایہہ ہو اسماؤ۔ وہ اس میں محو و مجذوب ہو گیا ۔ سبد سیتی ۔ کلام سے ۔ سچے ۔ صدیوی خدا ۔ بھاؤ۔ پیار۔ آپے ہیرا۔ خدا ہی ہے ہیرا۔ دے بجھائے ۔ سمجھادے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کلام مرشد ایک نہایت بیش قیمت نعمت ہے ۔ جس طرح ایکجڑا و ہیرا ہوتا ہے جس کے دل کو یہ اچھا لگا وہ اس میں محو وجذو ب ہو گیا ۔ اگر کلام سے بن آئے تو صدیوی صچے خدا سے پریم پیار ہوجاتا ہے ۔ جسے سمجھادے وہ خود ہی ہیرا اور رتن ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ کلام مرشد ایک رتن ہے جس میں الہٰی نام سچ و حقیقت کا ہیرا جڑا ہوتا ہے ۔

سِۄسکتِآپِاُپاءِکےَکرتاآپےہُکمُۄرتاۓ॥
ہُکمُۄرتاۓآپِۄیکھےَگُرمُکھِکِسےَبُجھاۓ॥
توڑےبنّدھنہوۄےَمُکتُسبدُمنّنِۄساۓ॥
گُرمُکھِجِسنوآپِکرےسُہوۄےَایکسسِءُلِۄلاۓ॥
کہےَنانکُآپِکرتاآپےہُکمُبُجھاۓ॥੨੬॥
لفظی معنی:
سو۔ روحانی بیداری ۔ سکت ۔ دنیاوی دلوت ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد ۔ اپائیکے ۔ پیدا کرکے ۔ کرتا ۔ قادر۔ ورتائے ۔ جاری کرتا ے ۔ دیکھے ۔ نگرانی کرتا ہے ۔ بھجائے ۔ سمجھاتا ہے ۔ توڑے بندھن ۔ غلامی مٹاتا ہے ۔ ہووے مکت۔ آزاد ہوتا ہے ۔ نجات پاتا ہے ۔ سبد من وسائے ۔ کلام دل میں بسا کر ۔ ایکس سیو لو لائے ۔ وحدت سے ۔ محبت اور لگن بنا کر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
(روحانی ) روح اور دنیاوی دولت پیدا کرکے اُس کے آپسی رشتے کا حکم جاری کرتا ہے اور خؤد ہی اس کھیل کی نگرانی کرتا ہے کسی مرید مرشد کو اس کے متعلق سمجھع یات کرتا ہے جو اس دنیاوی دولت کی غلامی سے نجات پا لیتا ہے ۔ وہ کلام مرشد دل میں بسا لیتا ہے ۔ سبق مرشد کا عامل وہی ہوتا ہے ۔ جسے خدا خود عنایت توفیق کرتا ہے وہ واحد خدا سے محبت کرتا ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ خدا نے خود ہی دنیاوی دولت یعنی قائنات قدرت اور انسانی روح یا بیداری مغری پیدا کی ہے ۔

سِم٘رِتِساست٘رپُنّنپاپبیِچاردےتتےَسارنجانھیِ॥
تتےَسارنجانھیِگُروُباجھہُتتےَسارنجانھیِ॥
تِہیِگُنھیِسنّسارُبھ٘رمِسُتاسُتِیاریَنھِۄِہانھیِ॥
گُرکِرپاتےسےجنجاگےجِناہرِمنِۄسِیابولہِانّم٘رِتبانھیِ॥
کہےَنانکُسوتتُپاۓجِسنواندِنُہرِلِۄلاگےَجاگتریَنھِۄِہانھیِ॥੨੭॥
لفظی معنی:
پُن پاپ ۔ثواب و گناہ ۔ تتے ۔ اصلیت و حقیقت ۔ تہی گنی ۔ تینوں اوصاف ۔ سار ۔ خبر۔ سمجھ ۔ بھرم۔ وہم وگمان ۔ ۔ شک و شہبات ۔ بھٹکن۔ رین وہانی ۔ زندگی کی رات ۔ مراد عمر گذر جاتی ہے ۔ جاگے ۔ بیداری ۔ سمجھ ۔ انمرت ۔ بانی ۔ آب ۔ حیات کی مانند کلام۔ مراد میٹھی زبان سے میٹھے بول۔ تت ۔ حقیقت۔ اند ن ۔ ہر روز ( انمرت بانی ) ہر لو ۔ الہٰی محبت۔ رین وہانی ۔ عمر یا حیات گذرتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سمرتیوں اور شاشتروں میں صرف انسنای عامل کے نیک و بد میں تمیز کرنے میں خیالات کا اظہار ہے ۔ جب کہ اصلیت کی متعلق سمجھ نہیں ہے جس کی مرشد کے بغیر اصلیت کی سمجھ نہیں آتی ۔ ساری علام تینوں اوصاف میں حکومت طاقت اور لالچ کی غفلت میں سو رہا ہے مراد محو ومجذوب ہے اور عمر گذر رہی ہے ۔ نانک کہتا ہے اصلیت و حقیقت کا پتہ اُسے چلتا ہے ۔ جو ہر رو ز پیا ر خدا سے کرتا ہے اور بیداری وسمجھداری میں عمر گذرتا ہے رحمت مرشد سے بیداری و سمجھدار وہی ہے جو آب حیات جیسے میٹھے بول زبان سے نکالتا ہے ۔ نانک کہتا ہے حقیقت اُسے حاصل ہوتی ہے جو ہر روز محبت خدا سے کرتا ہے ۔ بیداری و سمجھداری میں عمر گذارتا ہے ۔

ماتاکےاُدرمہِپ٘رتِپالکرےسوکِءُمنہُۄِساریِئےَ॥
منہُکِءُۄِساریِئےَایۄڈُداتاجِاگنِمہِآہارُپہُچاۄۓ॥
اوسنوکِہُپوہِنسکیِجِسنءُآپنھیِلِۄلاۄۓ॥
آپنھیِلِۄآپےلاۓگُرمُکھِسداسمالیِئےَ॥
کہےَنانکُایۄڈُداتاسوکِءُمنہُۄِساریِئےَ॥੨੮॥
لفظی معنی:
اور ۔ پیٹ۔ پرتپال۔ پرورش۔ وساریے ۔ بھلاییئے ۔ یوڈ۔ اتنا بڑا ۔ لگن ۔ آگ۔ آہار۔ خوراک ۔ پوہ ۔ اثر انداز۔ کہو ۔ کچھ ۔ لو۔ محبت۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ سدا۔ ہمیشہ ۔ سمالیئے ۔د ہمیں بسائیں۔ ایوڈ داتا۔ اتنا بڑا داتا۔ اگن ۔ آگ۔ وساریئے ۔ بھالئیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں ۔ جو ماتا کے پیٹ میں بھی پرورش کرتا ہے اُسے کیوں دل سے بھلائیا جائے جو اتنا بھاری سخی اور سخاوت کرتا ہے کہ ماں کے پیٹ کی آگ میں بھی خوراک پہنچاتا ہے کیوں دل سے بھلائیا جائے خدا جس کو محبت کراتا ہے اپنی اُس پر کچھ بھی اثر انداز ہو نہیں سکتا۔ خدا ہی محبت خود ہی بخشش کرتا ہے مرشد کے ذریعے اُسے یاد رکھنا چاہیئے ۔ نانک کا فرمان یہی ہے اتنے بھاری سخی کو کیوں بھلائیا جائے ۔
مراد:
مراد مرشد کے سبق پر عمل کرنے سے کوئی برائی اثر پذیر نہیں و سکتی ۔ جسے خڈا پانی محبت کی بخشش کرتا ہے ۔ روحانی وذہنی سکون کے حصول کا یہی واحد وسیلہ ہے ۔

جیَسیِاگنِاُدرمہِتیَسیِباہرِمائِیا॥
مائِیااگنِسبھاِکوجیہیِکرتےَکھیلُرچائِیا॥
جاتِسُبھانھاتاجنّمِیاپرۄارِبھلابھائِیا॥
لِۄچھُڑکیِلگیِت٘رِسنامائِیاامرُۄرتائِیا॥
ایہمائِیاجِتُہرِۄِسرےَموہُاُپجےَبھاءُدوُجالائِیا॥
کہےَنانکُگُرپرسادیِجِنالِۄلاگیِتِنیِۄِچےمائِیاپائِیا॥੨੯॥
لفظی معنی:
اگن ادھر میہہ۔ جسیی ہے پیٹ کی آگ ۔ تیسی ۔ دیسی ہی ۔ باہر مائیا۔ ویسی ہے دنیا میں دنیاوی دولت کی آگ۔ کھیل رچائیا۔ کار ساز ۔ کرتار کا ہے یہ کھیل۔ بھانا۔ رضا۔ اچھا لگا۔ پریوار بھلائیا۔ تو گھر کے اہل وعیال کو چھا لگا۔ ترشنا۔ پیاس۔ امر۔ حکم۔ فرمان۔ ورتائیا۔ جاری کیا۔ بھاؤ دوجا ۔ خدا کے علاوہ دوسروں سے محبت گر پر سادی ۔ رحمت مرشد ے لو لاگی ۔ محبت ہوگئی ۔ دچے مائیا۔ دنیاوی دولت کے ہوتے ہوئے ۔ ملاپ کا سکون حاصل کیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے ماں کے پیٹ میں آگ ہے ویس ہی ہے بیرونی دنیا میں مائیا یا دنیاوی دولت کا عذاب یہ آگ کا عذاب اور دنیاوی دولت کا عذاب ایک ہی طرح کے عذاب ہیں خدا نے یہ ایک کھیل بنائیا ہے ۔ جب رضائے الہٰی ہوتی ہے تو جم انسان کو دیتا ے تو پیار پر یوار کا پاتا ہے ۔ الہٰی محبت چھوٹ جاتی ہے تب دنیاوی دولت کی بھوک پیاس شرو ع ہو جاتی ہے اوردنیاوی دولت کی حکومت قائم ہوجاتی ہے اس دنیاوی دولت کی وجہس ے خدا بھول جاتا ہے خڈا کے علاوہ دوسروں سے محبت ہوجاتی ہے ۔ نانک کہتا ہے رحمت مرشد سے جن کی محبت خدا سے ہوجاتی ہے ۔ خدا سے وہ دنیاوی دولت کی محبت کے باوجود سکون روحانی وذہنی پالتیے ہیں۔
مراد:
رحمت مرشد سے جن کی محبت دنیاوی کار وبار کرتے ہوئے خدا سے رہتی ہے ۔ ان کے دل میں روحانی و زہنی سکون بنا رہتا ہے دنیا میں انسان کے جنم کے ساتھ ہی خدا سے رابطہ توٹ جاتا ہے ۔ محبت ختم ہوجاتی ہے ۔

ہرِآپِامُلکُہےَمُلِنپائِیاجاءِ॥
مُلِنپائِیاجاءِکِسےَۄِٹہُرہےلوکۄِللاءِ॥
ایَساستِگُرُجےمِلےَتِسنوسِرُسئُپیِئےَۄِچہُآپُجاءِ॥
جِسداجیِءُتِسُمِلِرہےَہرِۄسےَمنِآءِ॥
ہرِآپِامُلکُہےَبھاگتِناکےنانکاجِنہرِپلےَپاءِ॥੩੦॥
لفظی معنی:
امولک ۔جس کی قیمت مقرر نہ ہو سکے اتنا بیش قیمت ۔ کسے وٹہو ۔ کسی سے ۔ بل لائے ۔ چیختے پکارتے ۔ سر سوپیئے ۔ سر پیش کریں۔ آپ ۔ خودی۔ جیو۔ جاندار۔ مخلوق ۔ ہر وسے من۔ دلمیں خدا بستا ہے ۔ ( املک ) پلے ۔ لڑ ۔ دامن ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا ایک ایسی ہستی ہے جس کی قیمت مقرر نہیں کی جا سکتی خدا کا دیدار و وصل کسی قیمت سےد ستیاب نہیں ہو سکتا ۔ جس کے لئے لوگ چیخ و پکار و جہدو ترود کرتے کرتے شکست کھاتے رہے ۔ اگر ایسا مرشد مل جائے جس کے سبق سے خودی دل سے دور ہوجاتے ۔ جس کی ملکیت ہے یہ انسان اُسکا وصل و ملاپ حاصل ہو جائے اور دل میں بسا جائے اُسےا پنا پیش کرتا ہے ۔ اے نانک خدا کی قیمت مقرر نہیں کیجاسکتی ۔ بلند قسمت ہیں ہو لوگ جن کو خدا اپنے دامن لگا لیتا ہے ۔

ہرِراسِمیریِمنُۄنھجارا॥
ہرِراسِمیریِمنُۄنھجاراستِگُرتےراسِجانھیِ॥
ہرِہرِنِتجپِہُجیِئہُلاہاکھٹِہُدِہاڑیِ॥
ایہُدھنُتِنامِلِیاجِنہرِآپےبھانھا॥
کہےَنانکُہرِراسِمیریِمنُہویاۄنھجارا॥੩੧॥
لفظی معنی:
ہر راس میری ۔ خدا میرا سرمایہ ہے ۔ من ونجارا۔ دل سوداگر ۔ستگر تے راس جانی ۔ سچا مرشد اس پونجی کو سمجھتا ہے ۔ ہر ہرنت چپہو ۔ ہر روز ریاض کرؤ خدا کی ۔ لاہا ۔ منافع۔ دھن۔ دولت۔ تنا۔ اُنکو ۔ جن ہرآپے بھانا۔ جو رضائےا لہٰی میں۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا میرا ایک سرمایہ ہےا ور دل اسکا سوداگر ۔ اس سرمایہ کی بابت سچے مرشد سے سمجھائیا ہے ۔ ہر روز یاد کرؤ خدا کو ہر روز اسکا نفع کماؤ۔ یہ دولت اُنہیں ملتی ہے جو ہیں رضائے الہٰی میں۔ نانک کہتا ہے خدا میری پونجی ہے ۔ من اکسا سوداگر ۔
مراد:
یہ مرشد سمجھاتا ہے کہ روحانی سکون حاصل کرنے کے لئے الہٰی نام ہی ایک سرمایہ ہے مگر یہ اُنہیں ملتا ہے ۔ جو رضائےا لہٰی میں راضی ہیں۔

اےرسناتوُانرسِراچِرہیِتیریِپِیاسنجاءِ॥
پِیاسنجاءِہورتُکِتےَجِچرُہرِرسُپلےَنپاءِ॥
ہرِرسُپاءِپلےَپیِئےَہرِرسُبہُڑِنت٘رِسنالاگےَآءِ॥
ایہُہرِرسُکرمیِپائیِئےَستِگُرُمِلےَجِسُآءِ॥
کہےَنانکُہورِانرسسبھِۄیِسرےجاہرِۄسےَمنِآءِ॥੩੨॥
لفظی معنی:
رسنا۔ زبان ۔ ان رس۔ دوسرے لفطوں میں۔ راج ۔ محو ۔ پیاس۔ لطفوں کا مزہ کی خواہش۔ ہورت کتے ۔کسی اور چیز سے ۔ جچر۔ جبتک ۔ ہر رس پلے نہ پائے ۔ الہٰی لطف ۔ دامن ۔ میں نہ ہو ۔ بہوڑ۔ دوبارہ۔ ترشنا۔ خواہشات کی پیاس۔ کرمی ۔ بخشش ۔ ہر وسے من آئے ۔ جب خدا دل میں بس جاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میری زبان تو دسرے لطفوں میں محو ومجذوب ہے اس طرحس ے تیری خواہشات کی تشنگی دور نہ ہوگی ۔ دوسرے کسی طریقے سے پیاس دور نہ ہوگی جب تک تیرے دامن میں الہٰی لطف نہ ہوگا۔ اے انسان تیرے دامن میں ہو الہٰی لطف اور لطف لے بھی تو دوبارہ تجھے خواہشات کی پیاس نہ ستائے گی ۔ یہ الہٰی لطف الہٰی بخشش سے ملتا ہے جسکا ملاپ سچے مرشد سے ہوجاتا ہے ۔ نانک کہتا ہے جب دوسرے لطف سب کو بھلائیا جائے تبھی الہٰی لطف دلمیں بستا ہے ۔

اےسریِرامیرِیاہرِتُممہِجوتِرکھیِتاتوُجگمہِآئِیا॥
ہرِجوتِرکھیِتُدھُۄِچِتاتوُجگمہِآئِیا॥
ہرِآپےماتاآپےپِتاجِنِجیِءُاُپاءِجگتُدِکھائِیا॥
گُرپرسادیِبُجھِیاتاچلتُہویاچلتُندریِآئِیا॥
کہےَنانکُس٘رِسٹِکاموُلُرچِیاجوتِراکھیِتاتوُجگمہِآئِیا॥੩੩॥
لفظی منی:
جوت ۔ نور۔ جیو۔ روح۔ جاندار۔ جان ۔ا پائے ۔ پیدا کرکے ۔جگت۔ دنیا۔ جہاں ۔ عالم ۔ بجھیا۔ سمجھیا۔ چلت ۔ کھیل۔ چلت ندری آئیا۔ تماشہ یا کھیل دیکھنے کو ملا یا۔ ندری ۔ نگاہ ۔ سر شٹ۔ عالم ۔ مول ۔ بنیاد ۔ اصل۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے جسم جب خدا نے اپنا نور عنایت کیا تب ہی تیرا وجود ظہور پذیر ہوا ہے ۔ تیرا خدا ہی ماں ہے خدا ہی باپ ہے جس نے تجھے پیدا کرکے علام کا دیدار کرائیا ہے ۔ جب رحمت مرشد سے سمجھ آتی ہے کہ یہ دنیا ایک کھیل اور تماشہ ہے چلنے والا کھیل اور تماشے کیس مجھ آجاتی ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ جب خڈا نے علام کی بنیاد رکھی تو تیرا اندر اپنا نور رکھا تب تو اس عالم میں ظہور پذیر ہوا۔

منِچاءُبھئِیاپ٘ربھآگمُسُنھِیا॥
ہرِمنّگلُگاءُسکھیِگ٘رِہُمنّدرُبنھِیا॥
ہرِگاءُمنّگلُنِتسکھیِۓسوگُدوُکھُنۄِیاپۓ॥
گُرچرنلاگےدِنسبھاگےآپنھاپِرُجاپۓ॥
انہتبانھیِگُرسبدِجانھیِہرِنامُہرِرسُبھوگو॥
کہےَنانکُپ٘ربھُآپِمِلِیاکرنھکارنھجوگو॥੩੪॥
لفظی منی:
چاؤ ۔ سکون ملا۔ خوشی ہوئی ۔ پربھ آگم سنیا ۔ الہٰی آمدسی ۔ ہر منگل گاؤ سکھی ۔ الہٰی خوشی کے گیت گاو ساتھی ۔ سوگ ۔ غمی ۔ افسوس۔ دوکھ ۔ عذآب ۔ دیاپیئے ۔ پیدا ہو۔ سبھاگے ۔ خوش بخت۔ خوش قسمت ۔ پر جاپیئے ۔ خاوند یا خدا کی سمجھ ائی ۔ انحت ۔ ان آحت ۔ وہ کلام جو بے آوز ہو ۔ گر سبد۔ کلام مرشد۔ جانی ۔ سمجھ آئی ۔ ہر نام ہر رس۔ الہٰی نام سچ و حقیقت کا لطف یا مزہ ۔ بھوگو ۔ حاصل کرؤ۔ کرن ۔ کرنے ۔ کارن ۔ سبب پیدا کرنے ۔ جوگو ۔ کی توفیق رکھنے والا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب خدا کے دل میں بسنے کی بابت سُنا تو دل نے سکون محسوس کیا اور خوشی پیدا ہوئی ۔ اے ساتھیو الہٰی آمد کی خوشی میں خوشی کے گیت گاؤ کہ میرا دل و ذہن الہٰی مندر اور خدا کا گھر بن گیا ہے ۔ خدا کی حمدوثناہ کرؤ تاکہ غمی اور عذاب نہ آئے پائے مرشد کا آسرا لو اس سے خوش قسمت ہوجاؤ گے ۔ اور خدا وند کریم کی سمجھ پاؤ گے ۔ اُس ان احت کلام کی کلام مرشد سے سمجھ آتی ہے الہٰی نام سچ و حقیقت (س ے ) کا لطف اُٹھاؤ نانک کہتا ہے کہ خدا سبھ کچھ کرنے اور کرانے کی توفیق رکھتا ہے ۔ خود آکر مجھے ملاپ عنایت کیا ۔

اےسریِرامیرِیااِسُجگمہِآءِکےَکِیاتُدھُکرمکمائِیا॥
کِکرمکمائِیاتُدھُسریِراجاتوُجگمہِآئِیا॥
جِنِہرِتیرارچنُرچِیاسوہرِمنِنۄسائِیا॥
گُرپرسادیِہرِمنّنِۄسِیاپوُربِلِکھِیاپائِیا॥
کہےَنانکُایہُسریِرُپرۄانھُہویاجِنِستِگُرسِءُچِتُلائِیا॥੩੫॥
لفظی منی:
جگ ۔ عالم ۔ دنیا ۔ تُدھ ۔ تو نے ۔ کرم کمائیا ۔ کونسے اعمال کئے ۔ رچن رچیا۔ تیری بناوٹ بنائی اور پیدا کیا۔ سو۔ اُسے ۔ من نہ بسائیا ۔ دل میں نہ بسائیا ۔ پورب لکھیا۔ پہلے سے تحریر شدہ ۔ پروان ۔ منظور۔ قبول۔ جن ستگر سر چت۔ لائیا۔ جس نے مرشد پر اعتماد ظاہر کیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے جسم اس جہاں میں پیدا ہوکر کونسے اعمال کئے ہیں جسے تیری بناوٹ بنائی اور جنم دیا اُسے تو نے دلمیں نہیں بسائیا۔ جب رحمت مرشد سے پہلے سے تیرے اعمالنامے میں تحریر کی مطابق دلمیں بسا۔ نانک کہتا ہے تب یہ جسم قبول و منظور ہو ا جسنے مرشد سچے پر اعتماد کیا اور محبت کی ۔

اےنیت٘رہُمیرِہوہرِتُممہِجوتِدھریِہرِبِنُاۄرُندیکھہُکوئیِ॥
ہرِبِنُاۄرُندیکھہُکوئیِندریِہرِنِہالِیا॥
ایہُۄِسُسنّسارُتُمدیکھدےایہُہرِکاروُپُہےَہرِروُپُندریِآئِیا॥
گُرپرسادیِبُجھِیاجاۄیکھاہرِاِکُہےَہرِبِنُاۄرُنکوئیِ॥
کہےَنانکُایہِنیت٘رانّدھسےستِگُرِمِلِئےَدِبد٘رِسٹِہوئیِ॥੩੬॥
لفظی منی:
نیتر ہو ۔ آنکھوں ۔ جوت ۔ نور ۔ روشنی ۔ ہربن ۔ خدا کے بغیر ۔ اور ۔ دوسرا۔ ندری ۔ نگاہ سے ۔ نہالیا۔ دیدار کیا۔ گر پر سادی بجھیا۔ رحمت مرشد سے سمجھیا۔ اک ۔ واحد ۔ اور نہ کوئی ۔ نہیں کوئی دوسرا۔ ایہہ نیتر اندھ سے ۔ یہ انکھیں اندھی تھیں۔ دبھ درسٹ ہوئی ۔ دور اندیشی ملی ۔
ترجمہ
اے میری آنکھوں خدا نے تمہیں اپنا نور عنایت کیا ہے اس لئے خدا کے بغیر دوسری طرف اپنی نظر نہ دوڑاؤ جدھر دیکھو دیدار الہٰی پاؤ گے ۔ یہ سارا عالم جسکا دیدار نظر آرہا ہے خدا کی ہی شکل وصورت ہے ۔ رحمت مرشد سےس مجھ آئی ہے ۔ جہاں دیکھتا ہوں واھد خدا نظر آتا ہے نہیں اس کے بغیر دوسری کوئی ہستی ۔ نانک کہتا ہے کہ سچے مرشد کے ملاپ سے پہلے یہ آنکھیں اندھیاری تھیں سچے مرشد کے ملاپ سےدور اندیش ہوئی ہیں۔

اےس٘رۄنھہُمیرِہوساچےَسُننھےَنوپٹھاۓ॥
ساچےَسُننھےَنوپٹھاۓسریِرِلاۓسُنھہُستِبانھیِ॥
جِتُسُنھیِمنُتنُہرِیاہویارسنارسِسمانھیِ॥
سچُالکھۄِڈانھیِتاکیِگتِکہیِنجاۓ॥
کہےَنانکُانّم٘رِتنامُسُنھہُپۄِت٘رہوۄہُساچےَسُننھےَنوپٹھاۓ॥੩੭॥
لفظی معنی:
سرونہو۔ کانوں۔ پٹھائے ۔ خدا نے بنائے ہیں۔ ساچے ۔ صدیوی ۔ سچے خدا کو ۔ ست بانی ۔ صدیوی سچا کلام۔ جت ۔ جس نے ۔ من تن ۔ دل و جان ۔ ہر یا ہوا۔ خوشباش ہوا۔ رسنا رس ۔ سمانی ۔ زبان لطف میں محوو مذوب ہوئی ۔ سچ الکھ ۔ صدیوی سچ جسکا حساب نہ ہو سکے ۔ وڈائی ۔ حیران کرنے والی ۔ گت ۔ حالت ۔ انمرت نام۔ آبحیات الہٰی نام سچ و حقیقت ۔ پوتر ۔ پاک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے کانوں تجھے سچے صدیوی خدا کا کلام سننے کے لئے الہٰی حمدوثناہ سننے کے لئے خدا نے لگائیا ہے ۔ تاکہ سچے صدیوی کلام کو سن سکو ۔ جس کےس ننےس ے دل و جان پر سکون اور خوشی محسوس کر تا ہے اور زبان اُسکے لطف میں محو ومجذو ب ہوجاتی ہے ۔ صدیوی سچ سچا خڈا جس کی بابت تحریر نہیں کیا جا سکتا نہ بیان ہو سکتا ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ اُس صدیوی عظیم ہستی کا نام سچ و حقیقت سنہو پاک و مقدس بنو تمہیں اسی کے سننے کے لئے لگائیا گیا ہے ۔

ہرِجیِءُگُپھاانّدرِرکھِکےَۄاجاپۄنھُۄجائِیا॥
ۄجائِیاۄاجاپئُنھنءُدُیارےپرگٹُکیِۓدسۄاگُپتُرکھائِیا॥
گُردُیارےَلاءِبھاۄنیِاِکنادسۄادُیارُدِکھائِیا॥
تہانیکروُپناءُنۄنِدھِتِسداانّتُنجائیِپائِیا॥
کہےَنانکُہرِپِیارےَجیِءُگُپھاانّدرِرکھِکےَۄاجاپۄنھُۄجائِیا॥੩੮॥
لفظی معنی:
جیؤ ۔ جاندار ۔ گچھا ۔ جسم۔ پون ۔ ہوا۔ سے سانس جاری ہوئے ۔ نو دوآرے ۔ دوکان ۔ دو آنکھیں۔ ناک کے دو سوراخ ۔ گدا لنگ۔ دسوا۔ ذہن پوشیدہ ہے ۔ پر گٹ ۔ ظاہر۔ بھاونی ۔ اعتماد۔ یقین ۔ ایمان۔ تیہہ۔ وہاں۔ انیک ۔ روپ ۔ بیشمار شکلیں۔ ناؤں۔ الہٰی نام۔ نوندھ نو خزانے ۔ انت ۔ آخر۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا نے ایک گچھا مراد جسم میں روح پھونک کر بولنے کی طاقت عنایت کی دوکان دو آنکھیں ۔ مونہہ ۔ ناک ۔ گدا لینگ ۔ ظاہر اور ذہن پوشیدہ عنایت کیا ۔ جنہیں مرشد کی وساطت سےا یمان یقین بخشش کیا اُنہیں دسویں دروازے مراد ذہن کا دیدار کرائیا۔ اُس حالت میں بیشمار شکلوں ناموں اور نو خزانے جسکا شمار اور اخر کا پتہ نہیں چلتا حاصل ہوتا ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ خدا نے اس جسم میں روح اور جان ڈال کر بولنے کی قوت عنایت فرمائی۔

ایہُساچاسوہِلاساچےَگھرِگاۄہُ॥
گاۄہُتسوہِلاگھرِساچےَجِتھےَسداسچُدھِیاۄہے॥
سچودھِیاۄہِجاتُدھُبھاۄہِگُرمُکھِجِنابُجھاۄہے॥
اِہُسچُسبھناکاکھسمُہےَجِسُبکھسےسوجنُپاۄہے॥
کہےَنانکُسچُسوہِلاسچےَگھرِگاۄہے॥੩੯॥
لفظی معنی:
ساچے گھر۔ سچے دل ۔ جھے سدا سچ دھیاوے ۔ جہاں ہمیشہ سچے سچ خدا کی یاد و ریاض کی جاتی ہے ۔ بھاویہہ ۔ اگر تیرا پیارا ہوجاؤں۔ گومکھ جابجھا وہے ۔ مرید مرشد نہیں سمجھائے ۔ خصم ۔ مالک ۔ پاوہے ۔ پاتا ہے ۔ سچ سوہلا۔ سچا سہاونا۔ نغمہ
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی حمدوثناہ پاکدامن انسانوں کی صحبت و قربت میں گائیا کرؤ جہاں ہمیشہ سچ مراد خدا میں دھیان لگائیا جاتا ہے ۔ اے خدا جنہیں مرید مرشد سمجھا دیتا ہے وہ تیری خوشنودی حاصل کرنے کے لئے سچے سچ خدا میں دھیان لگاتے ہیں۔ خدا ساری قائنات و مخلوق کا مالک ہے جس پر اُسکی بخشش ہوتی ہے وہی پاتا ہے ۔ نانک کہتا ہے کہ سچے پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں گانے نغمہ سرائی کرنے سے روحانی سکون حاصل ہوتا ہے ۔

اندُسُنھہُۄڈبھاگیِہوسگلمنورتھپوُرے॥
پارب٘رہمُپ٘ربھُپائِیااُترےسگلۄِسوُرے॥
دوُکھروگسنّتاپاُترےسُنھیِسچیِبانھیِ॥
سنّتساجنبھۓسرسےپوُرےگُرتےجانھیِ॥
سُنھتےپُنیِتکہتےپۄِتُستِگُرُرہِیابھرپوُرے॥
بِنۄنّتِنانکُگُرچرنھلاگےۄاجےانہدتوُرے॥੪੦॥੧॥
لفظی معنی:
انند۔ سارے کلام کا عرہ مصرعہ انند ہے ۔ وڈبھاگیو ۔ بلند قسمتوں ۔ سگل منورتھ ۔ سارے مقصد۔ پار برہم پربھ ۔ کامیابیاں عنایت کرنے والا خدا۔ اُترے سگل وسورے ۔ سارے روحانی و اخلاق طور پر پاک ہو جاتے ہیں اس کلام میں سا مرشد صاف دکھائی دیتا ہے ۔
نانک عرض گذارتا ہے جو شخص سچے مرشد میں یقین و ایمان لاتے ہیں ان کے ذہن و روح میں روحانی نغمے اور روحانی سازوں کی آوازیں سرور دیتی ہیں ۔
مراد:
جس کےد ل میں روحانی سکون پیدا ہوتا ہے اُس کی ذہنی بھٹکن ختم ہوجاتی ہے سارے فکر اور ہر قسم کی تشویش مٹ جاتی ہے عذاب جھگڑے مٹ جاتے ہیں۔

رامکلیِسدُ
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
جگِداتاسوءِبھگتِۄچھلُتِہُلوءِجیِءُ॥
گُرسبدِسماۄۓاۄرُنجانھےَکوءِجیِءُ॥
اۄرونجانھہِسبدِگُرکےَایکُنامُدھِیاۄہے॥
پرسادِنانکگُروُانّگدپرمپدۄیِپاۄہے॥
آئِیاہکاراچلنھۄاراہرِرامنامِسمائِیا॥
جگِامرُاٹلُاتولُٹھاکُرُبھگتِتےہرِپائِیا॥੧॥
لفظی معنی:
جگ ۔ عالم ۔ دنیا ۔ داتا۔ سخی ۔ دینے والا۔ بھگت وچھل۔ بھگتوں کا پیارا پیار کرنے والا۔ تیہہ لوئے ۔ تینوں عالموں کا ۔ گر سبد سماوئے ۔ کلام مرشد میں بستا ہے ۔ اور دوسرے ایک نام دھیاوئے ۔ واحد الہٰی نام سچ و حقیقت میں دھیان لگاتے ہیں۔ پر ساد نانک گرونگد ۔ رحمت مرشد سے نانک و انگد ۔ پرم پدوی ۔ بلند رتبہ ۔ پاوہے ۔ پائیا۔ ہاکار ۔ بلاو ا۔ چلتوار۔ اس دنیا سے کوچ کرنے کا ۔ رام نام سمائیا۔ الہٰی نام میں محو ومجذوب ہوگئے ۔ امر۔ صدیوی ۔ا ٹل۔ قائم دائم ۔ اتول ۔ جسے تول نہ کیا جا سکے مراد اتنا زیادہ ۔ ٹھاکر ۔ مالک ۔ بھگت نے ہر پائیا۔ بھگتی کے ذریعے الہٰی وصل حاصل کیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا جو عالم کو اپنی نعمتیں عطا کرنے والا ہے جو اپنے عاشقوں پریمیوں کو پیار کرنے والا ہے وہ کلام مرشد میں مضمر و مجذوب ہے ۔ کسی دوسرے کو اس کے علاوہ نہیں سمجھتا۔ اسکا ثانی مرشد کے کلام کےع لاوہ کسی سے تعلق نہیں واحد الہٰی نام سچ حق و حقیقت میں دھیان ہے ۔ رحمت نانک وانگد مرشدوں کے الہٰی عشق و پیار کا بلند ترین رُتبہ حاصل ہوا ۔ جب اس علام سے کوچ کرنے کا بلاو آئای جو الہٰی نام سچ حق و حقیقت مین محو ومجذوب تھا۔ جو دنیا میں صدیوی قائم دائم اعداد و شمار سے بلند و بالا مالک عالم اپنے عشق و محبت کے وسیلے سے حاصل کر لیا تھا۔

ہرِبھانھاگُربھائِیاگُرُجاۄےَہرِپ٘ربھپاسِجیِءُ॥
ستِگُرُکرےہرِپہِبینتیِمیریِپیَجرکھہُارداسِجیِءُ॥
پیَجراکھہُہرِجنہکیریِہرِدیہُنامُنِرنّجنو॥
انّتِچلدِیاہوءِبیلیِجمدوُتکالُنِکھنّجنو॥
ستِگُروُکیِبینتیِپائیِہرِپ٘ربھِسُنھیِارداسِجیِءُ॥
ہرِدھارِکِرپاستِگُرُمِلائِیادھنُدھنُکہےَساباسِجیِءُ॥੨॥
لفظی معنی:
ہر بھانا۔ رضائے الہٰی۔ گربھائیا۔ مرشد کا پیار ا ہوا۔ پیج ۔ عزت۔ ارداس۔ گذارش۔ نام نرنجنو۔ پاک الہٰی نام ۔ سچ حق و حقیقت ۔ انت چلدیاں۔ بوقت اخرت ۔ کوچ ۔ کرتے وقت ۔ بیلی ۔ دوست۔ جمدوت کال۔ موت کا ملازم۔ نکھجنو۔ جو بے حس و حرکت بنا دیتا ہے ۔ ستگرو ۔ سچا مرشد۔
ترجمہ معہ تشریح:
رضائے الہٰی مرشد کو پیاری ہوئی کیونکہ مرشد نے خدا کے پاس جانا ہے ۔ مرشد نے خدا کے رو برو گذارش کی کہ میری عزت بچاییئے ۔ اپنے خدمتگاروں کی عزت رکھیئے اور موت اور موت کے ملازموں کو ناکارہ بنا دینے والاالہٰی پاک نام سچ حق و حقیقت عنایت کیجیئے جو بوقت آخرت انسان دوست بنتا ہے ۔ خدا نےس چے مرشد کی گذارش جو اُس نے کی سنی اور اپنی کرم و عنایت سے سچا مرشد ملائیا اور شاباش عنایت فرمائی ۔

میرےسِکھسُنھہُپُتبھائیِہومیرےَہرِبھانھاآءُمےَپاسِجیِءُ॥
ہرِبھانھاگُربھائِیامیراہرِپ٘ربھُکرےساباسِجیِءُ॥
بھگتُستِگُرُپُرکھُسوئیِجِسُہرِپ٘ربھبھانھابھاۄۓ॥
آننّدانہدۄجہِۄاجےہرِآپِگلِمیلاۄۓ॥
تُسیِپُتبھائیِپرۄارُمیرامنِۄیکھہُکرِنِرجاسِجیِءُ॥
دھُرِلِکھِیاپرۄانھاپھِرےَناہیِگُرُجاءِہرِپ٘ربھپاسِجیِءُ॥੩॥
لفظی معنی:
میرے ہر بھانا۔ میرے خدا کی رضا و فرمان۔ گر بھائیا۔ مرشد کو پیارا ہوا۔ ساباس۔ تعریف۔ سوئی۔ وہی ۔ ہر پربھ ۔ بھانا۔ بھاوئے ۔ جسےا لہٰی رضا و فرمان پیارا ہے ۔ آنند۔ روھانی خوشی ۔ ذہنی خوشی۔ انحد۔ لگاتار ۔ بلارُکے ۔ وجیہہ واجے ۔ شادیانے ۔ سنگیت ۔ نرجاس۔ تحقیق۔ پروانا۔ تحریری فرمان حکم۔ پھرے نا ہی ۔ تبدیل نہیں ہوتا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے مریدوں۔ سکھو فرزندو اور بھائیوں خدا کی رضا و مرضی ہے کہ میرے پاس آو ۔ مرشد کو رضائے الہٰی عزیز ہے خدا اس کی تعریف و ستائش کرتا ہے وہی ہے الہٰی عاشق الہٰی پریمی اور سچا مرشد جسےا لہٰی رضا و فرمان سے رغبت ہے ۔ اُس کے ذہن میں لگاتار روحانی خوشی و سکون کے ساز و سنگیت ہوتے رہتے ہیں اور خدا خود گلے لگاتا ہے آپ میرے بیٹے بھائی اور کنبہ ہو دل میں قیاس آرائی کر ہو کہ الہٰی فرمان جو خدا کی طرف سے جاری ہوا ہے ۔ ملتوی نہیں ہو سکتا ۔ مرشد خدا کے پاس جا رہا ہے ۔

ستِگُرِبھانھےَآپنھےَبہِپرۄارُسدائِیا॥
متمےَپِچھےَکوئیِروۄسیِسومےَموُلِنبھائِیا॥
مِتُپیَجھےَمِتُبِگسےَجِسُمِتکیِپیَجبھاۄۓ॥
تُسیِۄیِچارِدیکھہُپُتبھائیِہرِستِگُروُپیَناۄۓ॥
ستِگُروُپرتکھِہودےَبہِراجُآپِٹِکائِیا॥
سبھِسِکھبنّدھپپُتبھائیِرامداسپیَریِپائِیا॥੪॥
لفظی معنی:
مول ۔ بالکل ۔ بھانے آپنے ۔ اپنی رضا و مرضی سے ۔ مت ۔ پیجے ۔ جسے دوست کی عزت و آبرو۔ مت وگسے ۔ دوست ۔ خوش ہوتاہے ۔ مت کی پیج بھاوئے ۔ دوست کی عزت پیاری ہے ۔ ہر ستگر و ( پہناوئے ) خدا مرشد کو خلعت پہناتا ہے ۔ ستگرو ۔ سچا مرشد پرتکھ ۔ ظاہر۔ سکھ ۔مرید ۔ بندھپ ۔ رشتہ دار ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچے مرشد نے اپنی رضا مندی نال ساتھ بیٹھ کر اپنے اہل و عیال کو بلائیا اور کہا کہ میرے موت کے بعد کسی نے نہیں رونا رونے والا مجھے پسند نہ ہوگا۔ جسے اپنے دوست کی عظمت اچھی لگتی ہے تو وہ خوش ہوتا ہے ۔ آپ بھی سوچ سمجھ کر دیکھ لیں خدا مرشد کو نواز رہا ہے اس لئے خوشی مناؤ اس کے بعد زندہ ہوتے ہوئے وارثت مرشدی عنایت کی اور سارے مریدوں بیٹوں اور بھائیوں کو گردروامداس کےپاؤں لگائیا۔

انّتےستِگُرُبولِیامےَپِچھےَکیِرتنُکرِئہُنِربانھُجیِءُ॥
کیسوگوپالپنّڈِتسدِئہُہرِہرِکتھاپڑہِپُرانھُجیِءُ॥
ہرِکتھاپڑیِئےَہرِنامُسُنھیِئےَبیبانھُہرِرنّگُگُربھاۄۓ॥
پِنّڈُپتلِکِرِیادیِۄاپھُلہرِسرِپاۄۓ॥
ہرِبھائِیاستِگُرُبولِیاہرِمِلِیاپُرکھُسُجانھُجیِءُ॥
رامداسسوڈھیِتِلکُدیِیاگُرسبدُسچُنیِسانھُجیِءُ॥੫॥
لفظی معنی:
انتے ۔ بوقت اخرت ۔ کیرتن ۔ الہٰی حمدوچناہ۔ نربان ۔ پاک صفت صلاح۔ بیبان ۔ سیڑھی ۔ ہر رنگ ۔ الہٰی پیار۔ گر بھاوئے ۔ مرشد کو پیارا ہے ۔ پنڈ ۔ پنے ۔ پتل ۔ پتوں کے بنائے برتن۔ کر یا دیوا۔ چراغ لگانے کا کام ۔ ہر سر ۔ الہٰی تالاب ۔ ہر بھائیا۔ا لہٰی پیار ہوا۔ پرکھ ۔ سجان ۔ دانشمند ۔ بیدار مغتر۔ ذہن۔ گر سبد۔ سچ نیسان ۔ کلام مرشد کا سچا مقصد منز ل ۔
ترجمہ معہ تشریح:
Missing

ستِگُرُپُرکھُجِبولِیاگُرسِکھامنّنِلئیِرجاءِجیِءُ॥
موہریِپُتُسنمُکھُہوئِیارامداسےَپیَریِپاءِجیِءُ॥
سبھپۄےَپیَریِستِگُروُکیریِجِتھےَگُروُآپُرکھِیا॥
کوئیِکرِبکھیِلیِنِۄےَناہیِپھِرِستِگُروُآنھِنِۄائِیا॥
ہرِگُرہِبھانھادیِئیِۄڈِیائیِدھُرِلِکھِیالیکھُرجاءِجیِءُ॥
کہےَسُنّدرُسُنھہُسنّتہُسبھُجگتُپیَریِپاءِجیِءُ॥੬॥੧॥
لفظی معنی:
رجائے ۔ رضائے ۔ مرضی ۔ سنتوکھ ۔ ساہمنے ۔ حاضر۔ رامداسے ۔ پیری پائے جیو ۔ رامداس کے پاؤں پڑیا۔ کیری ۔ کی ۔ جھتے گرو آپ رکھیا۔ جس میں مرشد نے اپنا آپا یا روح پھونکی ۔ بخیلی ۔ بغض۔ چغلی ۔ بدگوئی ۔ بھانا۔ چاہ ۔ رضا۔ مرضی ۔ وڈیائی ۔ بلند عظمت۔ لیکھ ۔ تحریر۔ رجائے ۔ رضائے ۔ سبھ ۔ جگت۔ سارا عالم ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب سے مرشد امرداس نے فرمان کیا تو مریدوں نے حکم مان لیا۔ سب سے گرو امرداس جی کے فرزند موہری جی گرو رامداس کے پاؤں پڑے سجدہ کیا اور سر خرو ہوئے اور گرو امرداس نے اپنی روح گرو رامداس میں ٹکائی ۔ اس کے بعد سارے لوگ اُس کے پاؤں پڑے ۔ اگر کوئی بد گوئی کرکے نہیں جھکا تھا اس کو بھی امرداس نے پاؤں پائیا۔ سندر کہتا ہے اے سنتہو سنہو گر و امرداس نے پاؤں پائیا۔ سندر کہتا ہے اے سنتہو سنتہو گرو امرداس اور خدا کو اچھا لگا انہوں نے امر داس کو عطمت عنایت کی جیسا کہ الہٰی فرمان تھا خدا کی طرف سےا س لئے سارےعالم نے تسلیم کیا۔

رامکلیِمہلا੫چھنّت
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
ساجنڑامیراساجنڑانِکٹِکھلوئِئڑامیراساجنڑا॥
جانیِئڑاہرِجانیِئڑانیَنھالوئِئڑاہرِجانیِئڑا॥
نیَنھالوئِیاگھٹِگھٹِسوئِیااتِانّم٘رِتپ٘رِءگوُڑا॥
نالِہوۄنّدالہِنسکنّداسُیاءُنجانھےَموُڑا॥
مائِیامدِماتاہوچھیِباتامِلنھُنجائیِبھرمدھڑا॥
کہُنانکگُربِنُناہیِسوُجھےَہرِساجنُسبھکےَنِکٹِکھڑا॥੧॥
لفظی معنی:
ساجنٹرا ۔ ساجن ۔ دوست۔ نکٹ ۔ نزدیک۔ کھلوئیڑا۔ کھڑا ہے ۔ جانئڑا ہر ۔ مالک زندگی خدا۔ نین ۔ آنکھیں۔ الوئیا۔ دیکھا۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں۔ سوئیا ۔ بستا ہے ۔ ات ۔ نہایت ۔ انمرت۔ آبحیات۔ ایسا پانی جو زندگی کو جاویداں بنا دیتا ہے ۔ پریہ ۔ پیارا۔ گوڑا۔ گوڑھا ۔ نہایت زیادہ ۔ مائیا مدھ ماتا۔ دنیاوی دولت کے نشے میں مخمور مست ( ہو چھی باتا) نال ہو وندا۔ ساتھ ہے ۔ لیہہ نہ سکندا۔ حاصلنہیں ہو سکتا۔ سوآؤ ۔ لطف ۔ موڑا ۔ جاہل۔ ہوچھی بات ۔کم عقلی ۔ دھڑآ۔ پارٹی ۔ بھرم۔ بھٹکن۔ وہم وگمان۔ سوجھے ۔ سمجھے ۔ ہر ساجن۔ دوست خدا۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا پیارا دوست میرےس اتھ میرے نزدیک ہے ۔ خدا مجھے اپنی جان اور زندگی سے پیارا ہے اُس زندگی کے پیارے کو اپنی جان اور زندگی سے پیارا ہے اس زندگی کے پیارے کو اپنی آنکھوں سے دیکھ لیا ہے میں نے اپنی آنکھوں سے دیدار پالیا ہے ہر دلمیں بستا ہے وہ مجھے آبحیات کی مانند پیار پاک دوست ہے ۔ ساتھ ہے مگر حاصل نہیں ہو سکتا کیونکہ جاہل انسان کو اُس کے لطف کا پتہ نہیں۔ دنیاوی دولت کے نشے میں مخمور اور مست کم عقلی کی باتیں کرتا ہے وہم وگمان اور بھٹکن کا ساتھی ہونے کی وجہ سے ملاپ نہیں ہو سکتا۔ اے نانک بتادے کہ مرشد کے بغیر سمجھ نہیں آتی جب کہ سبھ کے نزدیک ہے ۔ (1)

گوبِنّدامیرےگوبِنّداپ٘رانھادھارامیرےگوبِنّدا॥
کِرپالامیرےکِرپالادانداتارامیرےکِرپالا॥
دانداتارااپراپاراگھٹگھٹانّترِسوہنِیا॥
اِکداسیِدھاریِسبلپساریِجیِءجنّتلےَموہنِیا॥
جِسنوراکھےَسوسچُبھاکھےَگُرکاسبدُبیِچارا॥
کہُنانکجوپ٘ربھکءُبھانھاتِسہیِکءُپ٘ربھُپِیارا॥੨॥
لفظی معنی:
گوبند۔ مالک زمین ۔ پران ادھار۔ زندگی کے آسرا ۔ کر پالا۔ مہربان۔ دان داتار۔ خیرات دینے والے سخی ۔ا پر اپارا۔ اتنا وسیع کہ کنارہ نہیں۔ کوئی حدو د یابتہ نہیں۔ گھٹ گھٹ انتر۔ ہر دلمیں بسنے والا۔ داسی دھاری ۔ غلام بنائی ۔ سبل پساری ۔ جسکا بھاری پھیلاؤ ہے ۔ جیئہ جنت۔ ساری مخلوقات ۔ موہنیا ۔ اپنی محبت کی گرفت میں لے رکھا ہے ۔ سوسچ بھاکھے ۔ وہ سچا الہٰی نام سچ حق و حقیقت کہتا ہے گر کا سبد کلام مرشد ۔ پربھ ھانا الہٰی محبوب خدا چاہتا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے مالک عالم اے زندگی کے سہارے خدا اے مہربان میرے مہربان سخاوت کرنے والے سخی نعمتیں عنایت کرنے والے مہربان اے اعداد و شمار سے بعید خدا وند کریم اے ہر دل میں بسنےوالے خوشباش آپ نے ایک غلام پیدا کی ہے جسکا بھاری پھیلاؤ ہے جس نے ساری مخلوقات کو اپنی شخصت کی گرفت میں گرفتار کر رکھا ہے جسکا محافظ ہو حقیقت اور خدا و ہ کلام مرشد کرتا ہے بیان سو چ سمجھ کر اے نانک بتادے کہ جسکو ہے محبت خدا سے وہ ہی خدا کو پیارا ہے ۔

مانھوپ٘ربھمانھومیرےپ٘ربھکامانھو॥
جانھوپ٘ربھُجانھوسُیامیِسُگھڑُسُجانھو॥
سُگھڑسُجاناسدپردھاناانّم٘رِتُہرِکاناما॥
چاکھِاگھانھےسارِگپانھےجِنکےَبھاگمتھانا॥
تِنہیِپائِیاتِنہِدھِیائِیاسگلتِسےَکامانھو॥
کہُنانکتھِرُتکھتِنِۄاسیِسچُتِسےَدیِبانھو॥੩॥
لفظی معنی:
مانو ۔ فخر۔ وقار۔ جانو ۔ سمجھو ۔ سگھڑ ۔ منصوبہ ساز۔ تجویز بنانے والا۔ سجان ۔ دانشمند۔ سد۔ ہمیشہ ۔ پردھانا۔ مانا ہوا۔ سوآمی ۔ آقا۔ انمرت۔ آبحیات ۔ ہر کاناما ۔ الہٰی نام سچ و حقیقت۔ چاکھ ۔ بطور غور لطف ۔ اگھانے ۔ سیر ہوئے ۔ سارگ پانے ۔ خدا۔ بھاگ ۔ قسمت ۔ تقدیر ۔ ستھانے ۔ پیشانی ۔ تنہی ۔ انہی۔ دھیائیا۔ دھیان لگائیا۔ سگل ۔ سارے ۔ مانو ۔ وقار۔ تھر۔ مستقل ۔ تخت۔ ایسا مقام یا جگہ جہاں بیٹھ کر عدل و انصاف کیاجاتا ہے ۔ نواسی ۔ بسنے والا۔ سچ نسے دیبانو ۔ سچی ۔ سچ پر مبنی عدالت یا کچہری ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا ہی با وقار قابل فخر ہستی و شخصیت ہے وہی راز دان دانشمند اور ہر دل عزیز ہے ۔ اسکا الہٰی نام سچ و حقیقت روحانی وا خلاقی زندگی عنایت کرنے والا ہے ۔ جن کی پیشانی پر اس کی تقدیر بیدار ہوتی ہے وہ اس الہٰی نام جو آبحیات کے لطف سے سیر ہوجاتےہیں۔ کوئی تمنا باقی نہیں رہتی انہوںنے ہی خدا کو پائیا ہے ۔ جنہوں نےا لہٰی نام سچ حق و حقیقت میں اپنا دھیان لگائیا ہے ۔ سب اور سارے خلقت و مخلوقات کو اُسی پر فخر حاصل ہے اور اُسی کا آسرا ہے ۔ اے نانک بتادے کہ وہ ضدیوی سلامت و برقرار ہے صرف اُس کی عدالت مجاز صدیوی انصاف بخشنے والی ہے ۔

منّگلاہرِمنّگلامیرےپ٘ربھکےَسُنھیِئےَمنّگلا॥
سوہِلڑاپ٘ربھسوہِلڑاانہددھُنیِئےَسوہِلڑا॥
انہدۄاجےسبداگاجےنِتنِتجِسہِۄدھائیِ॥
سوپ٘ربھُدھِیائیِئےَسبھُکِچھُپائیِئےَمرےَ’ن’آۄےَجائیِ॥
چوُکیِپِیاساپوُرنآساگُرمُکھِمِلُنِرگُنیِئےَ॥
کہُنانکگھرِپ٘ربھمیرےکےَنِتنِتمنّگلُسُنیِئےَ॥੪॥੧॥
لفظی معنی:
منگلا۔ خوشی کے گیت۔ میرے پرھ۔ میرے خدا۔ سوہلڑا ۔ الہٰی حمدوچناہ ۔ انحد۔ لگاتار۔ سبد۔ کلام۔ اگابے ۔ ظہور پذیر ۔ وبدھائی ۔ شاباش۔ دھیایئے ۔ دھیان لگائے ۔ چوکی پیاسا۔ پیاس ختم ہوئی ۔ مراد و خوہاش مٹی ۔ پورن آسا۔ اُمید پوری ہوئی ۔ نر گنیئے ۔ دنیاوی تینوں خواہشات سے بلند ۔
ترجمہ
خدا کی خوشیوں کے گیت سنہو الہٰی خوشیوں کے گیت ۔ الہٰی حمدوثناہ کے گیت جس کی لگاتار دھنیں اور سریں ہو رہی ہیں۔ خدا ہمیشہ برتی و بلندی میں رہتا ہے ۔ اُس کی محنت صلاح کی ہر وقت سرود ساز بجتے رہتےہیں اورہر روز مبارکباد یں ملتی ہیں۔ اُس خدا میں توجہ و دھیان لگاؤ جو نہ پیدا ہوتا اور نہ ہے موت اُسے وہی ہر شے دینے والا ہے دنیاوی دولت کی بھوک پیاس مٹ جاتی ہے ۔ اُمیدیں برآور ہوتی ہیں اور مرید مرشد ہوکر پاک خدا کا ملاپ حاصل ہوتا ہے ۔ اے نانک ۔ خدا کے گھر ہر روز خوشیاں اپنا مقام رکھتی ہیں۔

رامکلیِمہلا੫॥
ہرِہرِدھِیاءِمناکھِنُنۄِساریِئےَ॥
رامرامارامرماکنّٹھِاُردھاریِئےَ॥
اُردھارِہرِہرِپُرکھُپوُرنُپارب٘رہمُنِرنّجنو॥
بھےَدوُرِکرتاپاپہرتادُسہدُکھبھۄکھنّڈنو॥
جگدیِسایِسگد਼پالمادھوگُنھگوۄِنّدۄیِچاریِئےَ॥
بِنۄنّتِنانکمِلِسنّگِسادھوُدِنسُریَنھِچِتاریِئےَ॥੧॥
لفظی معنی:
کھن۔ آنکھیں چھپکنے کےعرصے کے لئے ۔ وسریئے ۔ بھولئے ۔ گھنٹ ۔گلے ۔ ار۔ دل۔ ذہن ۔ دھرییئے ۔ بساییئے ۔ پرکھ پورن۔ کامل خدا۔ پار بہرم۔ کامیابی عنایت کرنے والا۔ نرنجنو ۔ بیداغ ۔ پاک ۔ بھے ۔ خوف۔ پاپ۔ گناہ ۔ہرتا۔ دور کرنے والا۔ دسیہہ دکھ ۔ ناقابل برداشت عذاب۔ بھو کھنڈ نو۔ نجات دلانے والا۔ جگدیس ۔ مالک عالم۔ گوپال۔ مالک ۔جہاں۔ مادہو ۔ مالک قائنات ۔ گن گوبند۔ الہٰی اوصاف۔ بنونت۔ عرض گذارتا ہے ۔ سنگ ۔ سادہو ۔ صحبت پاکدامن ۔ دنس۔ رین ۔ روز و شب۔ دن رات ۔ چتارییئے ۔ یاد کریں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل ہر وقت خدا کو یاد کر آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے نہ دل سے بھلاؤ۔ خدا کو اپنے دل میں بسآو۔ مراد حمدوثناہ کرؤ اور دلمیں و ذہن نشین کیجیئے ۔ ذہن نشین کر اس پاک بیداغ کامل کامیابیاں عنایت کرنے والے خدا کو جو خوف مٹاتا ہے ۔ گناہ دور کرتا ہے نا قابل برداشت عذاب مٹاتا ہے ۔ اور نجات دلاتا ہے ۔ جو ماک ہے عالم کا اور قائنات کی سحبت و قربت میں روز و شب دلمیں بسایئے ۔

چرنکملآدھارُجنکاآسرا॥
مالُمِلکھبھنّڈارنامُاننّتدھرا॥
نامُنرہرنِدھانُجِنکےَرسبھوگایکنرائِنھا॥
رسروُپرنّگاننّتبیِٹھلساسِساسِدھِیائِنھا॥
کِلۄِکھہرنھانامپُنہچرنھانامُجمکیِت٘راسہرا॥
بِنۄنّتِنانکراسِجنکیِچرنکملہآسرا॥੨॥
لفظی معنی:
چرن کمل ۔ پائے پاک۔ آدھار۔ آسرا۔ سہارا۔ جن کا ۔ خادمان خدا کا ۔ مال۔ اثاثہ ۔ ملکھ ۔ ملک ۔ جائیداد ۔ بھنڈار ۔ ذخیرے ۔ خزانے ۔ نام۔ الہٰی نام ۔ سچ ۔ حق و حقیقت ۔ اننت۔ اعداد و شمار سے بعید۔ دھرا۔بسانا۔ تر ہر ۔ خدا۔ ندھان۔ خزانہ ۔ رس بھوگ۔ لطف اُٹھانا۔ رس ۔ روپ رنگ۔ شکل وصورت ۔ اننت۔ بیٹھ۔ لا محدود خدا۔ ساس ساس ۔ ہر لمحہ ہر سانس۔ کل وکھ ۔ پاپ ۔ دوش ۔ گناہ ۔ ہرنا۔ دور کرانا۔ پنیہہ چرنا۔ پچھتاپر کرنا۔تراس ۔ خوف۔ راس ۔ سرمایہ۔ پونجی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی پناہ ہی عاشقان الہٰی کے لئے زندگی کا آسرا و سہارا ہے ۔ اس لا محدود لا فناہ خدا کا نام سچ حق و حقیقت ہی دلمیں بسانا ہی دولت سرمایہ و نعمت او ر ملکیت اراضی ہے ۔ جن کے دل میں الہٰی نام کا خزانہ بس جاتا ہے ان کے لئے الہٰی نام کی یادوریاض ہی دنیاوی لطفوں کا لطف اُٹھانا ہے ۔ اس لا محدود پاک نام کی ہر لمحہ ہر سانس یا و رکھنا ہی دنیاوی نعمتوں کے لطف اور خوشیاں اور کھیل ہیں ۔ الہٰی نام تمام گناہ دور کرنے والا اور پچھتانے کا اعمال ہے ۔ الہٰی نام سے ہی موت کا خوف مٹتا ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے ۔ کہ پناہ الہٰی ہی الہٰی عاشقوں کے لئے سرمایہ ہے ۔

گُنھبیئنّتسُیامیِتیرےکوءِنجانئیِ॥
دیکھِچلتدئِیالسُنھِبھگتۄکھانئیِ॥
جیِءجنّتسبھِتُجھُدھِیاۄہِپُرکھپتِپرمیسرا॥
سربجاچِکایکُداتاکرُنھامےَجگدیِسرا॥
سادھوُسنّتُسُجانھُسوئیِجِسہِپ٘ربھجیِمانئیِ॥
بِنۄنّتِنانککرہُکِرپاسوءِتُجھہِپچھانئیِ॥੩॥
لفظی معنی:
گن ۔ وصف۔ چنگیائیاں۔ نیکیاں۔ بےا نت۔ لا محدود ۔ بیشمار ۔ جانئی ۔ سمجھتا نہیں جا تتا نہیں۔ چلت۔ کھیل ۔ طرز کار ۔ دیال۔مہران۔ وکھانئی ۔ بیان کرتے ہیں۔ جیئہ جنت۔ مخلوقات ۔ دھیاوہے ۔ دھیان لگاتے ہیں۔ پرکھ پت پر میسور ۔ پرکھ ۔ انسان۔ پت۔ عزت۔ مالک۔ پرمیسور ۔ پرم۔ بلند ۔ ایسور۔ مالک مراد۔ خڈا۔ سرب۔ سارے ۔ جاچک ۔ بھکاری ۔ منگتے ۔ کرنا یئے ۔ رحمان الرحیم۔ جگدیسر ۔ مالک عالم ۔ سادہو ۔ جس نے طرز زندگی استوار بنالی ۔ سنت ۔ روحانی رہبر۔ سجان ۔ دانشمند۔ مانئی ۔ مقبول خدا کو ہوا۔ سوئے ۔ اُسے پچھانئی ۔ پہچانتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے آقا تو بیشمار اوصاف کا مالک ہے جس کی کلیات کو کوئی نہیں جناتا۔ اے خدا تیری طرز کار سے اے مہربان اور تیرے عاشقوں پریمی پیاریوں سے سنکر بیان کرتا ہے ۔ سارے مخلوقات تجھ میںد ھیان لگاتی ہے اے رحمان الرحیم ساری خواہشات و مخلوقات تیری رحمت کی محتاج اور بھکاری ہے تو احد سب نعمتیں عنایت کرنے والا سخی اور داتار ہے نانک عرض گذارتا ہے کہ اے خدا جس پر تو مہربان ہےا ُسے ہی تیری پہچان ہے ۔

موہِنِرگُنھاناتھُسرنھیِآئِیا॥
بلِبلِبلِگُردیۄجِنِنامُد٘رِڑائِیا॥
گُرِنامُدیِیاکُسلُتھیِیاسرباِچھاپُنّنیِیا॥
جلنےبُجھائیِساںتِآئیِمِلےچِریِۄِچھُنّنِیا॥
آننّدہرکھسہجساچےمہامنّگلگُنھگائِیا॥
بِنۄنّتِنانکنامُپ٘ربھکاگُرپوُرےتےپائِیا॥੪॥੨॥
لفظی معنی:
موہ۔ میں۔ نرگن۔ بے وصف۔ اناتھ ۔ بے مالک۔ سرنی ۔ پناہ ۔ زیر سایہ۔ گرویو ۔ فرشتہ مرشد۔ نام۔ الہٰی نام۔ سچ حق و حقیقت ۔ درڑائیا۔ یاد میں ذہن میں مکمل طور پر پختہ کرائیا۔ کسل ۔ خوشحال ہوا۔ سرب اچھا ۔ ساری خواہشات ۔ پنیا۔ پوری ہوئیں۔ جلنے ۔ حسد۔ بجھائی۔ مٹائی ۔ سانت ۔ سکون ۔ چری ۔ دیرینہ ۔ وچھونیا۔ جدائی پائے ہوئے ۔ ہرکھ ۔سکون ۔ خوشی۔ منگل ۔ خوشی کے گیت ۔ گر پورے ۔ کامل مرشد۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا میں بے اوصاف ۔ بے مالک بے ساہارا مگر تیرے زیر سایہ تیری پناہ آگیا ہوں ۔ قربان ہوں آپ پر صدقے جاتا ہوں مرشد پر جس نے دل و ذہن میں الہٰی نام سچ و حقیقت پختہ کرا دیا ۔ مرشد نے الہٰی نام بخشش کرکے خوشحال بنا دیا اور ساری خواہشات پوری ہوگئیں۔ ذہنی کوفت مٹی سکون ملا اور دیرینہ جدائی کے بعد وصل حاصل ہوا۔ روحانی و ذہنی سکون سچے صدیوی خدا کے خوشی کے نغمے گائے ۔ نانک عرض گذارتاہے ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت کامل مرشد سے حاصل ہوئی ۔

رامکلیِمہلا੫॥
رُنھجھُنھوسبدُاناہدُنِتاُٹھِگائیِئےَسنّتنکےَ॥
کِلۄِکھسبھِدوکھبِناسنُہرِنامُجپیِئےَگُرمنّتنکےَ॥
ہرِنامُلیِجےَامِءُپیِجےَریَنھِدِنسُارادھیِئےَ॥
جوگدانانیککِرِیالگِچرنھکملہسادھیِئےَ॥
بھاءُبھگتِدئِیالموہندوُکھسگلےپرہرےَ॥
بِنۄنّتِنانکترےَساگرُدھِیاءِسُیامیِنرہرےَ॥੧॥
لفظی معنی:
رُن جھنو۔ آہستہ آہستہ پر لطف میٹھی آواز۔ روحانی و ذہنی خوشیوں سے مخمور نغمہ ۔ سبد۔ کلام۔ انا حد۔ ان آخرت ۔ بے اواز۔ مراد اندرونی ذہنی سمجھ کا کلام۔ واحد ۔ ان حد۔ بغیر حد ۔ مراد لگاتا بغیر کے ۔ سنتن کے ۔ روحانی رہبروں پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں۔ نت اُٹھ گایئے ۔ ہر روز بیدار ہوکر حمدوثناہ کریں ۔ کل وکھ ۔ گناہ ۔ بدیاں۔س بھ دوکھ ۔ سارے عذاب ۔ تکلیفات ۔ بناسن۔ مٹ جاتے ہیں۔ ہرجاپ ۔ الہٰی یادویراض سے ۔ ہر نام ۔ الہٰی نام ۔ سچ و حقیقت و حقیقت گر منتن کے ۔ مرشد کے سبق و اعظ نصیحت سے ۔ امیئو سیجے ۔ آبحیات نوش کیجیئے ۔ پیجیئے ۔ رین ۔ دنس۔ دان اور رات۔ شب و روز۔ ارادھیئے ۔ حمدوثناہ کیجیئے ۔ جوگ ۔ جوگیوں کے الہٰیریاض کے طریقے ۔ دان ۔ خیرات۔ انیک کریا۔ بیشمار طریقوں سے ۔ سادھیئے ۔ا نجام دہی ۔ بھاؤ بھگت۔ پیار پریم۔ دیال موہن ۔ مہربان دل کو پانی محبت کی گرفت میں لینے والا۔ دوکھ سگلے پر ہرے ۔ سارے عذاب مٹا دیتا ہے ۔ ترے ساگر۔ زندگی کے سمندر کو عبور کر لیتے ہیں مراد زندگی کا میاب ہوجاتی ہے ۔ دھیائے سوآمی نرہرے ۔ اپنے خدا کی یاد وریاض سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہر روز روحانی رہبروں پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں میٹھی میٹھی سروں اور دھنوں والی آواز میں الہٰی حمدوثناہ کا کلام ونغمہ سرائی کیجیئے الہٰی نام سچ و حق و حقیقت سارے عیبوں برائیوں گناہوں کو مٹانےو الا ہے ۔ اسے مرشد کے سبق و واعظ کی مطابق پر عمل پیرا ہوکر یادوریاض کرنی چاہیے ۔ الہٰی نام حق سچ و حقیقت پر عمل کرتا یاد رکھنا آبحیات پینا ہے ۔ اس میں روز و شب دھیان دینا چاہیے ۔ سایہ الہٰی بیشمار حیرات و ثواب اور ایسے ہی دوسرے طور طریقوں کی انجام دہی اور ادائیگی ہے ۔ الہٰی محبت و پیار عشق مہربان و مشفق جو سب کے دل کو اپنی محبت کی گرفت میں لے لیتا ہے سارے عذاب و تکلیفات دور کر دیتا ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ الہٰی یادوریاض سےا نسانی زندگی کامیاب ہوجاتی ہے ۔ جو ایک سمندر کی مانند ہے ۔

سُکھساگرگوبِنّدسِمرنھُبھگتگاۄہِگُنھتیرےرام॥
اندمنّگلگُرچرنھیِلاگےپاۓسوُکھگھنیرےرام॥
سُکھنِدھانُمِلِیادوُکھہرِیاک٘رِپاکرِپ٘ربھِراکھِیا॥
ہرِچرنھلاگابھ٘رمُبھءُبھاگاہرِنامُرسنابھاکھِیا॥
ہرِایکُچِتۄےَپ٘ربھُایکُگاۄےَہرِایکُد٘رِسٹیِآئِیا॥
بِنۄنّتِنانکپ٘ربھِکریِکِرپاپوُراستِگُرُپائِیا॥੨॥
لفظی معنی:
سکھ ساگر۔ آرام و آسائش کا سمندر۔ گوبند سمرن ۔ یاو وریاض خدا۔ بھگت ۔ پریمی ۔ پیارے ۔ عاشقان الہٰی ۔ گن ۔ اوساف ۔ انند منگل۔ روحانی و سکون و خوشی۔ گر چرنی ۔ پائے مرشد۔ سیاہ مرشد ۔ گھنیرے ۔نہایت زیادہ ۔ سکھ ندھان۔ آرام و آسائش کا خزانہ ۔ دوکھ ہریا ۔ عذاب مٹا ۔ راکھیا۔ حفاظت کی ۔ بھرم ۔ وہم و گمان۔ ذہنی کوفت یا بھٹکن ۔ہر نام رسنا۔ بھاکھیا۔ زبان سےا لہٰی نام لیا۔ ہر ایک چتوے ۔ واحد خدا دلمیں بسائیا ۔ پربھ ایک گاوے ۔ واحد خدا کی حمدوثناہ کی ۔ہر ایک درسٹی ۔ ائیا ۔ واحد خدا نظر آئیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے آرام و آسائش کے سمندر خدا کی یاوریاض اور حمدوثناہ کرتے ہیں ۔ اے کدا خوشیاں اور روحانی سکون و آرام و آسائش حاصل ہوتا ہے ۔ پائے مرشد پڑنے سے خڈا نے اپنی کرم و عنایتس ے عذاب مٹآئیا اور حفاظت کی ۔ جس نے پناہ مرشد اختیار کی ۔ اس کی بھٹکن اور خوف مٹآ جس نے الہٰی نام سچ و حقیقت کی ریاض کی اور زبان سے الہٰی نغمہ سرائی کی ۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ جس پر خدا نے کرم و عنایت فرمائی اسکا ملاپ مرشد سے ہوا وہ واحد خدا کو یاد کرتا ہے واحد خدا کی حمدوثناہ کرتا واحد خدا کا ہی کرتا ہے ۔

مِلِرہیِئےَپ٘ربھسادھجنامِلِہرِکیِرتنُسُنیِئےَرام॥
دئِیالپ٘ربھوُدامودرمادھوانّتُنپائیِئےَگُنیِئےَرام॥
دئِیالدُکھہرسرنھِداتاسگلدوکھنِۄارنھو॥
موہسوگۄِکاربِکھڑےجپتناماُدھارنھو॥
سبھِجیِءتیرےپ٘ربھوُمیرےکرِکِرپاسبھرینھتھیِۄا॥
بِنۄنّتِنانکپ٘ربھمئِیاکیِجےَنامُتیراجپِجیِۄا॥੩॥
لفظی معنی:
دامودر۔ کرشن مراد خدا۔ مادہو ۔ خدا ۔ گنیے ۔ الہٰی اوساف ۔ یاد کرھیں۔ دکھ ہر سرن داتا۔ عذاب دور کرنے والا اپنی پناہ میں رکھ کر ۔ سگل دوکھ نوار نو ۔ سارے عذاب مٹانے والا۔ موہ محبت سوگ ۔ غمی ۔ افسوس۔ وکار ۔ برائیاں۔ نوار نو ۔ دور کرنے والا۔ جپت نام۔ نام سچ و حقیقت کی یاد ۔ ادھار نو ۔ بچانے والا۔ سبھ رینت ھیوا۔ سارے دہول ہوجائیں۔ مئیا۔ مہربانی ۔نام تیرا جپ جیوا۔ اے خدا تیرے نام سچ وحق و حقیقت کی یاد وریاض سے اخلاقی و روحانی زندگی حاصل ہوتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں الہٰی عاشقوں پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں ملکر رہنا چاہیے اورا لہٰی صفت صلاح سننی چاہیے الہٰی اوساف کا شمار نہیں کیا جاسکتا ۔ خدا مہربان ہے تکلیف مٹاتا ہےا پنی پناہ دینے والا ہے اور سارے عذاب مٹاتا ہے اُس کے نام کی یادوریاض سے دنیاوی محبت غمیگنی دشوار بدیوں سے نجا ت ملتی ہے ۔ اے خدا کرم و عنایت فرما ساری مخلوقات تیری پیدا کی ہوئی ہے ۔ تکاہ میں ان کے پاؤں کی دہول ہوجاؤں۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ اے خڈا مہربانی فرما کر تیرے نام سچ حق وحقیقت کی یاوریاض سے روحانی و اخلاقی زندگی حاصل کرؤں۔

راکھِلیِۓپ٘ربھِبھگتجنااپنھیِچرنھیِلاۓرام॥
آٹھپہراپناپ٘ربھُسِمرہایکونامُدھِیاۓرام॥
دھِیاءِسوپ٘ربھُترےبھۄجلرہےآۄنھجانھا॥
سداسُکھُکلِیانھکیِرتنُپ٘ربھلگامیِٹھابھانھا॥
سبھاِچھپُنّنیِآسپوُریِمِلےستِگُرپوُرِیا॥
بِنۄنّتِنانکپ٘ربھِآپِمیلےپھِرِناہیِدوُکھۄِسوُرِیا॥੪॥੩॥
لفظی معنی:
بھوجل۔ خوفناک سمندر۔ رہے آون جانا ۔ آواگون ۔ تناسخ ۔ کلیان ۔ خیرو عافیت ۔ کیرتن ۔ حمدوثناہ ۔ بھانا۔ رضائے الہٰی۔ اچھ ۔ خواہش۔ پنی ۔ پوری ہوئی ۔ آس ۔ اُمید ۔ ستگر پوریا ۔ کامل مرشد۔ وسوریا ۔ پچھتاوے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا اپنے عابدوں رضا کاروں عاشقوں پریمیوں کی اپنےسایہ و پناہ سے اُن کی حفاظت کرتا ہے محافظ ہے اُن کا ہر وقت ہر روز اپنے خدا کے نام سچ حق و حقیقت میں دھیان لگانا چاہیے ۔ جو دھیان لگاتا ہے وہ زندگی کے خوفناک سمندر سے پار ہوجاتا ہے ۔ ہمشیہ خوشحالی حمدوثناہ اور رضائے الہٰی سے محبت ہوجاتی ہے ۔ کامل مرشد کے ملاپ سے تمام خواہشات پوری ہوجاتی ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے جنہیں خدا نے خود ملا لیا اُنہیں نہ عذاب آتا ہے نہ غمیگنی ستاتی ہے ۔

رامکلیِمہلا੫چھنّت॥
سلوکُ॥
چرنکملسرنھاگتیِاندمنّگلگُنھگام॥
نانکپ٘ربھُآرادھیِئےَبِپتِنِۄارنھرام॥੧॥
چھنّتُ॥
پ٘ربھبِپتِنِۄارنھوتِسُبِنُاۄرُنکوءِجیِءُ॥
سداسداہرِسِمریِئےَجلِتھلِمہیِئلِسوءِجیِءُ॥
جلِتھلِمہیِئلِپوُرِرہِیااِکنِمکھمنہُنۄیِسرےَ॥
گُرچرنلاگےدِنسبھاگےسربگُنھجگدیِسرےَ॥
کرِسیۄسیۄکدِنسُریَنھیِتِسُبھاۄےَسوہوءِجیِءُ॥
بلِجاءِنانکُسُکھہداتےپرگاسُمنِتنِہوءِجیِءُ॥੧॥
لفظی معنی:
چرن کمل ۔ پائے پاک ۔ سر تاگئی ۔ زیر سایہ رہ کر ۔ انند ۔ سنگل۔ پر سکون خوشی۔ ارادتھیئے ۔ عبادت کریں۔ بپت ۔ مصیبت ۔ نوار نو۔ مٹانے والا ( چھنت) جل تھل مہئل سمندر۔ زمین اور خلا ۔ نمکھ آنکھ جھپکنے کے عرسے کے لئے سوئے ۔ وہی ۔ سبھاگے ۔ خوش قسمت۔ سرب گن ۔ سارے اوصاف۔ جگدیسرے ۔ مالک علام۔ ونس رینی ۔ شب و روز ۔ تس بھاوے ۔ جو وہ چاہتا ہے ۔ بل جائے ۔ قربان ہوئے ۔س کھہہ داتے ۔ آرام و آسائش پہنچانے والے سخی۔ پر گاس۔ روشن۔
ترجمہ معہ تشریح:
(سلوک) جو زیر سایہ رہ کر حمد الہٰی کرتے ہیں وہ خوشیوں میں مخمور رہتے ہیں سکون وہ پاتے ہیں اے نانک عبادت کرنی چاہیے خدا کی وہ عذاب مٹانے والا ہے (چھنت) خدا ہی مصیبت دور کرےو الا ہے اس کے بغیر ہے ایسی توفیق کسے ہمیشہ کرو عبادت اُس کی جو سمندر مین اور خلاص میں بستاہے ۔ جو ہر جائ ی ہے نہیں بھلانا چاہیے اپنےد ل سے ۔ پائے مرشد پڑنےس ے خوشحالی میں وقت گذرتا ہے اور وصل الہٰی ہوتا ہے ۔ اے انسان گر تو خدمت روز و شب جو وہ چاہتا ہے ہوتا ہے وہی ناک قربان ہے اُس آرام و آسائش پہنچانے ولاے سخی داتا پر جس کی کرم و عنایت پر جس نے روح و زہن کو روشن کر دیا ۔

سلوکُ॥
ہرِسِمرتمنُتنُسُکھیِبِنسیِدُتیِیاسوچ॥
نانکٹیکگد਼پالکیِگوۄِنّدسنّکٹموچ॥੧॥
چھنّتُ॥
بھےَسنّکٹکاٹےنارائِنھدئِیالجیِءُ॥
ہرِگُنھآننّدگاۓپ٘ربھدیِناناتھپ٘رتِپالجیِءُ॥
پ٘رتِپالاچُتپُرکھُایکوتِسہِسِءُرنّگُلاگا॥
کرچرنمستکُمیلِلیِنےسدااندِنُجاگا॥
جیِءُپِنّڈُگ٘رِہُتھانُتِسکاتنُجوبنُدھنُمالُجیِءُ॥
سدسدابلِجاءِنانکُسربجیِیاپ٘رتِپالجیِءُ॥੨॥
لفظی معنی:
سمرت ۔ یاد وریاض ۔ دتیا ۔ دوسرے ۔ سو چ ۔ فکر ۔ سنکٹ موج۔ مسیبت دور کرنے والا ( چھنت) بھے سنکٹ ۔ خوف و عذاب ۔ دینا ناتھ ۔ غریب پور ۔ پرتپال۔ پرورش کرنے والا۔ اچت۔ لافناہ ۔ رنگ ۔ پریم ۔پیار۔ کر ۔ ہاتھ ۔ مستک ۔ پیشانی ۔پنڈ ۔ جسم۔ جیو ۔ زندگی ۔ روح۔ گریہہ۔ گھر۔ تھان۔ جگہ ۔ مقام ۔ جوبن ۔ جونای ۔ سرب جیئہ ۔ سارے جانداروں ۔ ساری مخلوقات۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی عبادت سے د ل و جان آرام و آسائش محسوس کرتا ہے ۔ اور دوسرے فکر و غمیگنی مٹتی ہے ۔ اے نانک الہٰی آسرا مصیب مٹاتا ہے (چھنت) خوف و مصیبت دور کی مہربان خدا نے جس نے کی عبادت خدا صدیوی ہے جو پروردگار اُس سے پیار ہوگیا ۔جس نے ہاتھ پیشانی رکھی اُس کے پاؤں اُسے اپنائیا اُسنے ملاپ دیا اور بیدار کای۔ یہ زندگی جسم گھر مقام اور جوانی و دولت ہے اُسی کی دی ہوئی ۔ سدا ہے قربا ن نانک اُس پر سب پروردگار ہے جو ۔

سلوکُ॥
رسنااُچرےَہرِہرےگُنھگوۄِنّدۄکھِیان॥
نانکپکڑیِٹیکایکپرمیسرُرکھےَنِدان॥੧॥
چھنّتُ॥
سوسُیامیِپ٘ربھُرکھکوانّچلِتاکےَلاگُجیِءُ॥
بھجُسادھوُسنّگِدئِیالدیۄمنکیِمتِتِیاگُجیِءُ॥
اِکاوٹکیِجےَجیِءُدیِجےَآساِکدھرنھیِدھرےَ॥
سادھسنّگےہرِنامرنّگےسنّسارُساگرُسبھُترےَ॥
جنممرنھبِکارچھوُٹےپھِرِنلاگےَداگُجیِءُ॥
بلِجاءِنانکُپُرکھپوُرنتھِرُجاکاسوہاگُجیِءُ॥੩॥
لفظی معنی:
رسنا۔ زبان۔ اُچرے ۔ بوے ۔ گن گوبند۔ الہٰی اوصاف ۔ وکھیان ۔ ویاکھیا۔ تشریح۔ ٹیک۔ آسرا۔ رکھنے ندان ۔ حفاظت کرتا ہے ۔ آخری وقت (چھنت) رکھ کو محافظ ۔ انچل ۔د امن۔ بھج سادہوسنگ۔ پاکدامنوں کی صحبت میں یاد خدا کرؤ۔ من کی مت ۔ اپنےد ل کی سمجھ تیاگ ۔ چھوڑ۔ اوٹ۔ آسرا۔ دھرتی دھرے ۔ زمین کے سہارے خدا۔ سنار ساگر ( زندگی کا ) عالمی سندر ۔ وکار ۔ بدیان۔ برائیاں۔ داغ۔ دھبہ ۔ تھر ۔ مستقل ۔ سوہاگ۔ خاوندوں والا آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
(سلوک )
جو نام خدا کا زبان سے لیتا ہے اور حمدوثناہ کرتا ہے اور سہارا خدا کو بناتا ہے تو آخر محافظ ہوتا ہے خدا اُسکا (چھنت) آخر ہے محفاظ خدا اے انسان دامن اُسکا تھام لے ۔ صحبت و قربت میں خدا رسیدہ پاکدامنون کی کر عبادت وریاضت الہٰی اپنے دل کی دانشمندی چھوڑ دے ۔ صحبت پاکدامن اور الہٰی نام سچ حق وحقیقت سے کر محبت اس سے دنیاوی زندگی کےس مندر کو عبور کیا جا سکتا ہے ۔ لہذا واحد خدا کو ہی اپنا آسرا بنا اور اپنا آپا اس کے حوالے کر دے اور اُسی سے اُمید رکھ ۔ اس سےا نسان برائیوں اور تناسخ سے نجات پا لیتا ہے اور بداعمالیوں کا زندگی پر دھبہ نہیں لگتا۔ جس خدا کا خاوند نہ سہارا ہمیشہ انسان رہتا ہے ۔ نانک اُس اوصاف سے مالا مال خدا ہر جگہ ہر جائی ہے قربان ۔

سلوکُ॥
دھرمارتھارُکامموکھمُکتِپدارتھناتھ॥
سگلمنورتھپوُرِیانانکلِکھِیاماتھ॥੧॥
چھنّتُ॥
سگلاِچھمیریِپُنّنیِیامِلِیانِرنّجنراءِجیِءُ॥
اندُبھئِیاۄڈبھاگیِہوگ٘رِہِپ٘رگٹےپ٘ربھآءِجیِءُ॥
گ٘رِہِلالآۓپُربِکماۓتاکیِاُپماکِیاگنھا॥
بیئنّتپوُرنسُکھسہجداتاکۄنرسناگُنھبھنھا॥
آپےمِلاۓگہِکنّٹھِلاۓتِسُبِنانہیِجاءِجیِءُ॥
بلِجاءِنانکُسداکرتےسبھمہِرہِیاسماءِجیِءُ॥੪॥੪॥
لفظی معنی:
دھرم :- اپنے فرائض روز مرہ پختگی سے ادا کرنے ۔
ارتھ :- دنایوی ضرورتوں کی تکمیل یا مکمل کرنا ۔
کام :- کامیابی حاصل کرنا زندگی کی اخلاقی و روحانی طور پر ۔
موکھ:- ہر طرح کی ذہنی و روحا نی طور پر بدیوں اور برائیوں سے نجات حاصل کر نا۔ مکت پدارتھ ناتھ ۔ نجات دہندہ اور نعمتوں کا مالک ہے منورتھ ۔ مقصد ۔ ماتھ ۔ پیشاین ( چھنت) چھ ۔ خواہش ۔ نرنجن ۔ بیداغ ۔ پاک ۔ رائے ۔ راجہ ۔ حکمرانی مراد خدا۔ انندھئیا ۔ سکون ملا ۔ خوشی جوئی ۔ پر گٹے ۔ ظہور پذیر ہوئے ۔ روشنی میں آئے ۔ پورب ۔پہلے سے ۔ پچھلا ۔ کمائے ۔ کمائیا ہوا۔ اپما ۔ تعریف ۔ گنا ۔ شمار ۔ کروں۔ سکھ سہج داتا۔ روحانی و ذہنی سکون بخشنے والا سخی ۔ کون رسنا۔ کونسی ۔ زبان سے ۔ گن بھنا۔ اوصاف بیان کروں گیہہ کنٹھ۔ گلے لگائے ۔ جائے ۔ جگہ ۔ مقام ۔ سبھ میں رہیا ۔ سمائے ۔ جو سب میں بستا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
دنیا کے چاروں نعمتوں کا مالک ہے خود خدا جس کی پیشانی ہوکندہ و تحریر اس کے اے نانک سارے مقصد حل ہوتے ہیں (چھنت) جب سے پاک خدا کا وصل نصیب ہوا ہے سارے مرادیں پوری ہوگئیں۔ اے بلند قسمت انسانوں جب سے ظہور پذیر ہوئے ہیں ۔ میرے مولا روحانی و ذہنی سکون ملا ہے ۔ مگر اُسکے دل و ذہن میں بستا ہے ۔ خدا جسنے کئے ہوتے ہیں نیک اعمال پہلے ۔ مجھ میں نہیں توفیق کہ اُ س کی تعریف کر سکوں ۔ وہ ہے اعداد و شمار سے باہر اور مخمور اوصاف سے ہے روحانی وذہنی سکون اور مستقل مزاجی بخشنے والا ہے کو ن کونسے اوصاف اُس کے سے کیوں ۔ وہ خود ہی ملاتا اور اپنے گلے لگاتا ہے ۔ نہیں اُسکے بغیرسہارا انسان کے لئے نہ ہے ایسا مقام کوئی ۔ قربان ہے ہمیشہ نانک اُس پر جوسب میں بستا ہے ۔

راگُرامکلیِمہلا੫॥
رنھجھُنّجھنڑاگاءُسکھیِہرِایکُدھِیاۄہُ॥
ستِگُرُتُمسیۄِسکھیِمنِچِنّدِئڑاپھلُپاۄہُ॥
لفظی معنی:
رُن ۔ آہستہ دھیمی آواز کا گیت یا نغمہ جو پر لطف ۔ اور رسیلی آواز میں ہو رہی ہو ۔ جھنجھنڑا۔ جھانجھروں کی جھنکار۔ ایک دھیاوہو ۔ واحد خدا میں دھیان لگاؤ۔ من چنڈریا۔ دلی خواہشات کی مطابق ۔ پھل۔ نتیجے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ساتھیو۔ خدا میں دھیان لگاؤ تاکہ دنیاوی تگ و دور روحانی ذہنی عقل و سلیم سے اس دنیاوی محبت پر عبور حاصل کر سکو لہذا الہٰی حمدوثناہ کا گیٹ گاؤ ۔ سچے مرشد کی خدمت سے دلی خواہشات کی مطابق نتیجے برآمد ہوتے ہیں۔

رامکلیِمہلا੫رُتیِسلوکُ
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
کرِبنّدنپ٘ربھپارب٘رہمباچھءُسادھہدھوُرِ॥
آپُنِۄارِہرِہرِبھجءُنانکپ٘ربھبھرپوُرِ॥੧॥
کِلۄِکھکاٹنھبھےَہرنھسُکھساگرہرِراءِ॥
دیِندئِیالدُکھبھنّجنونانکنیِتدھِیاءِ॥੨॥
چھنّتُ॥
جسُگاۄہُۄڈبھاگیِہوکرِکِرپابھگۄنّتجیِءُ॥
رُتیِماہموُرتگھڑیِگُنھاُچرتسوبھاۄنّتجیِءُ॥
گُنھرنّگِراتےدھنّنِتےجنجِنیِاِکمنِدھِیائِیا॥
سپھلجنمُبھئِیاتِنکاجِنیِسوپ٘ربھُپائِیا॥
پُنّندان’ن’تُلِکِرِیاہرِسربپاپاہنّتجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکسِمرِجیِۄاجنممرنھرہنّتجیِءُ॥੧॥
لفظی معنی:
جس ۔ تعریف ۔ حمدوثناہ ۔ بندھن۔ نمسکار ۔ سجدہ ۔ سلام ۔ باچھو ۔ مانگنا ۔ سادھیہہ ڈہور۔ پائے پاکدامنوں کی دہول ۔ آپ نوار۔ خودی دور کرکے ۔ بھجو یا کرؤ۔ پربھ بھر پور ۔ خدا سب میں بستا ہے (1) کل وکھ ۔ گناہ ۔ بھے ہرن ۔ خوف مٹانے والا۔ سکھ ساگر۔ آرام وآسائش کا سمندر ۔ دکھن بھنجن ۔ عذاب مٹانے والا۔ نیت ۔ ہر روز (2) (چھنت) وڈبھاگیہو ۔ بلند قسمت ۔ بھگونت ۔ تقدیر ساز۔ رُتی ۔ موسم۔ ماہ ۔ مہینے ۔ مورت ۔ مہورت۔ آغاز ۔ گھڑی ۔ وقت۔ گن اُچرت ۔ اوصاف ۔ بیانی ۔ سوبھاونت ۔ شہرت یافتہ ۔ شہرت ملنا۔ گن رنگ راتے ۔ الہٰی عشق میں محو ومجذوب۔ دھن۔ شاباش۔ سپھل۔ کامیاب ۔ برآور ۔ بھیا۔ ہوا۔ پن دان ۔ ثواب ۔ دان ۔ خیرات۔ تل ۔ برابر ۔ہنت ۔ مٹانے والا۔ دور کرنے والا۔ رہنت۔ ختم ہوجاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بندگی و آداب ادا کرنے کے بعد کامیاب عنایت کرنے والے خدا سے پاکدامن کے پاؤں کی دہول مانگتاہوں ۔ خودی مٹآ کر ۔ اُس سب میں بسنے والے خدا کو یاد کرتا ہوں (1) گناہوں کو مٹانے والے خوف دور کرنے والے اور آرام وآسائش دینے والے ہیں خداوند کریم ۔ غریب پرور درد و عذاب دور کرنے والے اے نانک اُسے ہر روز یاد کر دھیان لگاؤ (2) ( چھنت) اے تقدیر ساز خدا کرم و عنایت فرماتا کہ تیری حمدوثناہ میں گذرتا ہے بسر اوقات ہوتا ہے وہ شہرت پاتاہے ۔ جن کو الہٰی اوصاف سے محبت اور پریم پیار ہوجاتا ہے اور جو دل و جان سے یکسو ہوکر یاد خدا کو کرتے ہیں وہ بلند قسمت ہیں وہ لوگ جنہوں نے پالیا وصل الہٰی انہوں نے زندگی کا مدعا مقصد پالیا زندگی بنالی ۔ کوئی بھی کار ثواب اور خیرات نہیں برابر خدا کے نام سچ حق و حقیقت جو سارے گناہوں کو دور کرنے والا ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ اُس تناسخ مٹانے والے کی یاد میں گذرے میری زندگی

سلوک॥
اُدمُاگمُاگوچروچرنکملنمسکار॥
کتھنیِساتُدھُبھاۄسیِنانکنامادھار॥੧॥
سنّتسرنھِساجنپرہُسُیامیِسِمرِاننّت॥
سوُکےتےہرِیاتھیِیانانکجپِبھگۄنّت॥੨॥
چھنّتُ॥
رُتِسرسبسنّتماہچیتُۄیَساکھسُکھماسُجیِءُ॥
ہرِجیِءُناہُمِلِیامئُلِیامنُتنُساسُجیِءُ॥
گھرِناہُنِہچلُاندُسکھیِۓچرنکملپ٘رپھُلِیا॥
سُنّدرُسُگھڑُسُجانھُبیتاگُنھگوۄِنّدامُلِیا॥
ۄڈبھاگِپائِیادُکھُگۄائِیابھئیِپوُرنآسجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکسرنھِتیریِمِٹیِجمکیِت٘راسجیِءُ॥੨॥
لفظی معنی:
اُدم ۔ جُہد۔ کوشش۔ اگم ۔ انسانی رسائی سے بلند و بالا۔ اگر چر۔ جو بیان نہ ہو سکے ۔ چرن کمل ۔ پائے پاک ۔ نمسکار سجدہ ۔ جھکنا بطور ۔ آداب۔ کتھنی ۔ بیان ۔ بھادسی ۔ پسند۔ نام ادھار۔ سچ و حقیقت الہٰی نام کا آسرا (1) سو کے تے ہریا تھیا۔ پذمردہ سے ہریا ہوا (2) چھنت ) سرس۔ پر لطف ۔ ماہ ۔ مہینہ ۔ ماس۔ مہینہ ۔ ناہو۔ ناتھ ۔ مالک ۔ ناہو ۔ خاوند۔ نہچل۔ مستقل ۔ پرپُھلیا۔ کھلیا۔ بیتا ۔ جاننے ۔ والا۔ امُلیا۔ ۔ اتنا بیش قیمت کہ قیمت کا اندازہ نہ ہو سکے ۔ بھئی پون آس ۔ اُمید پوری ہوئی (2)
ترجمہ معہ تشریح:
اے خداوند کریم تو جہد ہے انسانی عقل و ہوش سےبلند و بالا اور بیان سےب عید ہے ۔ میں تجھے بطور ادب تعظیم سر جھکاتا ہوں ۔ سجدہ کرتا ہوں پاؤں پڑتا ہوں میں ہوی کہوں جو تجھے پیاری ہو نانک کو ہے تیرا ہی آسرا ہے (1)
اے دوستوں الہٰی عاشق خدا رسیدہ عارف کی پناہ میں رہو اور خدا کو یاد کرؤ اس سے پذمردگی اور پریشانیاں مٹ جاتی ہیں اے نانک الہٰی یاد وریاض سے انسان پزمردہ سے خوشباش و خوشحال ہوجاتا ہے ۔ (چھنت) پر لطف ہے موشم بہاد مہینہ چیت اور بیاکھ آرام آسائش دینے والا ہے اُسکے جس وصل و ملاپ الہٰی حاصل ہو جائے جاتا ہے اسکا دل و جان اور ہر سانس خوشیوں اور خؤشیوں سے بھر جاتا ہے ۔ جس کے دل میں خدا بس جاتا ہے ہمیشہ پر سکون اور خوشباش ہوجاتا ہے وہ دانشمند بیدار مغتر خوش بیان اور الہٰی اوصاف جن کی کوئی قیمت کا اندازہ نہیں ہو سکتا۔ اتنا قیمتی ہے کہ سمجھنے والا ہوجاتا ہے ۔ بلند قسمت سے اسکا ملاپ ووصل حاصل ہوتا ہے ۔ اور اُمید یں پوری ہوتیں ہیں۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ اے خدا تیرے سایہ وپناہ سے موت کا خوف مٹ جاتا ہے ۔

سلوک॥
سادھسنّگتِبِنُبھ٘رمِمُئیِکرتیِکرمانیک॥
کوملبنّدھنبادھیِیانانککرمہِلیکھ॥੧॥
جوبھانھےسےمیلِیاۄِچھوڑےبھیِآپِ॥
نانکپ٘ربھسرنھاگتیِجاکاۄڈپرتاپُ॥੨॥
چھنّتُ॥
گ٘ریِکھمرُتِاتِگاکھڑیِجیٹھاکھاڑےَگھامجیِءُ॥
پ٘ریمبِچھوہُدُہاگنھیِد٘رِسٹِنکریِرامجیِءُ॥
نہد٘رِسٹِآۄےَمرتہاۄےَمہاگاربِمُٹھیِیا॥
جلباجھُمچھُلیِتڑپھڑاۄےَسنّگِمائِیارُٹھیِیا॥
کرِپاپجونیِبھےَبھیِتہوئیِدےءِساسنجامجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکاوٹتیریِراکھُپوُرنکامجیِءُ॥੩॥
لفظی معنی:
گریکھم۔ گرمی ۔ سادھ سنگت۔ صحبت و قربت پاکدمناں بھرم ۔ بھٹکن ۔ کرم ۔ اعملا۔ نیک ۔ بیشمار۔ کومل۔ نازک ۔ بندھن۔ بندش۔ غلامی ۔ کرمیہہ لیکھ۔ اعمال کی تحریر کے مطابق (1) بھانے ۔ چاہت ۔ رضا۔ وچھوڑے ۔ جدائی ۔ وڈپرتاپ ۔ بلند وقار و عزت ( چھنت) رت ۔ موسم۔ گاکھڑی ۔ دشوار ۔ مشکل۔ اکھاڑے ۔ ہاڑ ۔ گھام ۔ گرمی ۔ ہمس ۔ پریم وچھوہ ۔ پیارے سے جدائی۔ دوہاگنی ۔ دو خاوندوں والی ۔ طلاقہ شدہ ۔ درسٹ۔ دیدار ۔ نگاہ ۔ ہاوے ۔ ہونکے ۔ گاربھ ۔ مٹھیا۔ غرور میں لٹی ہوئی ۔ رُٹھیا۔ روٹھی ہوئی ۔ غصے ۔ بھے بھیت ۔ خوفزدہ ۔ ساسن ۔ خبردارراکھ پورن کام۔ خواہشات پوری کرنے والے ۔
ترجمہ :
اے نانک پاک انسانوں کی صحبت و قربت کے بغیر بیشمار اعمال کرنے کے باوجود دنیاوی بندھنوں اور غلامیوں میں محسور انسان روحانی واخلاقی موت مرتا ہے (1) اے نانک۔ جو الہٰی رغبت و رضا میں ہوتے ہیں انہیں اپنا سایہ عنایت کرتا ہے اور جدائی بھی خود ہی دیتا ہے ۔ بے انسان الہٰی پناہ لو جو بھاری وقار بلند ہستی کا مالک ہے (چھنت) گرمی کا موسم نہایت سخت بیٹھ ہار میں سخت گرمی اور دہوپ ہوتی ہے ۔ بد قسمت انسان الہٰی محبت اور پیار سے محروم اور جدائی کی آگ میں جلتا رہتا ہے ۔ جو دیار الہٰی سے محروم رہتا ہے ۔ غرور اور مغرور میں محسور آہ وزاری کرتا رہتا ہے ۔ دنیاوی دولت کی محبت میں گرفتار بغیر پانی کے مچھلی کی مانند ٹرپتا رہتا ہے ۔ گناہوں کی وجہ سے ہمیشہ خوف زدہ رہتا ہے اور موت کے فرشتہ سے سزا پات اہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ اے خدا تیرا ہی ہے آسرا ہے سب کی خواہشات پوری کرنے والے ۔

سلوک॥
سردھالاگیِسنّگِپ٘ریِتمےَاِکُتِلُرہنھُنجاءِ॥
منتنانّترِرۄِرہےنانکسہجِسُبھاءِ॥੧॥
کرُگہِلیِنیِساجنہِجنمجنمکےمیِت॥
چرنہداسیِکرِلئیِنانکپ٘ربھہِتچیِت॥੨॥
چھنّتُ॥
رُتِبرسُسُہیلیِیاساۄنھبھادۄےآننّدجیِءُ॥
گھنھاُنۄِۄُٹھےجلتھلپوُرِیامکرنّدجیِءُ॥
پ٘ربھُپوُرِرہِیاسربٹھائیِہرِنامنۄنِدھِگ٘رِہبھرے॥
سِمرِسُیامیِانّترجامیِکُلسموُہاسبھِترے॥
پ٘رِءرنّگِجاگےنہچھِد٘رلاگےک٘رِپالُسدبکھسِنّدُجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکہرِکنّتُپائِیاسدامنِبھاۄنّدُجیِءُ॥੪॥
لفظی معنی:
سردھا ۔ یقین ۔ پریم۔ سنگ ۔ ساتھ۔ پریتے ۔ پیارے ۔ تل ۔ تھورے ۔ معمولی ۔ سہج سبھائے ۔ قدرتی طور پر (1) کر گیہہ لینی ہاتھ پکڑ لیا۔ تھام لیا۔ ساجنیہہ۔ دوت نے ۔ میت ۔ دوست ۔ چرن۔ پاؤں۔ داسی ۔ خادمہ ۔ ہت چیت ۔ دلی محبت (چھنت) رُت ۔ موسم ۔ ہرس۔ بارش ۔ گھن ۔ بادل۔ اُنو۔ جھک کر ۔ دٹھے ۔ برسے ۔ جل تھل ۔ زمین اور پانی ۔ مگر ند۔ خوشبودار ۔ پوریا۔ بھر گیا۔ سرب ٹھائی۔ ساری جگہ ۔ ہر نام نوندھ ۔ الہٰی نام کے نو خزانے ۔ گریہہ ۔ گھر۔ سموہا۔ سارے ۔ پریہ رنگ ۔ پیارے کے پیار یا پریم میں جاگے ۔ بیدار ہوئے ۔ چھیدر۔ عیب۔ برائی۔ بھاوند۔ پیار۔
ترجمہ:
(سلوک ) جسے پیار خدا سے ہوجائے نہیں خدا سے جدا ہو سکتا تل بھر کے وقفے کے لئے اُس کے دل میں بس جاتا ہے ۔ بلا جہدو تردو اے نانک قدرتاً (1) تھام لیا جسکا ہاتھ موت و پیدائش کے دوست نے اے نانک اُسے دلی پیار سے خادم اپنا بنا لیا ۔ اپنالیا (2) چھنت) اے ساتھیو ۔ جیسے ساون بھادوں کے مہینوں میں موسم بھاری خوش خلق ہوتا ہے اور ذہنی سکون اور خوشی ہوتی ہے ۔ اور بادل ھک جھک کر برستا ہے اور ماحول و چرگر داخوشبوؤں سے بھر جات اہے اور ہر جگہ پانی سے معطر ہوجاتی ہے اسی طرح سے ہر دل الہٰی نام سچ حق و حقیقت کے خزانوں سے بھر جاتا ہے ۔ اور ہر جگہ دیدار خدا پاتے ہیں۔ راز دل جاننے والے خدا کو یاد کرکے سارے خاندان اور قبیلے کا میاب بناتے ہیں ۔ ان کی زندگی پر کوئی داغ و دھبہ نہیں لگتا خدا مہربان ونجشند ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے ۔ کہ وہ وصل الہٰی پاتے ہیں اپنے پیارے خدا کا ۔

سلوک॥
آسپِیاسیِمےَپھِرءُکبپیکھءُگوپال॥
ہےَکوئیِساجنُسنّتجنُنانکپ٘ربھمیلنھہار॥੧॥
بِنُمِلبےساںتِناوُپجےَتِلُپلُرہنھُنجاءِ॥
ہرِسادھہسرنھاگتیِنانکآسپُجاءِ॥੨॥
چھنّتُ॥
رُتِسرداڈنّبرواسوُکتکےہرِپِیاسجیِءُ॥
کھوجنّتیِدرسنُپھِرتکبمِلیِئےَگُنھتاسجیِءُ॥
بِنُکنّتپِیارےنہسوُکھسارےہارکنّگنْنھدھ٘رِگُبنا॥
سُنّدرِسُجانھِچتُرِبیتیِساسبِنُجیَسےتنا॥
ایِتاُتدہدِسالوکنمنِمِلنکیِپ٘ربھپِیاسجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکدھارِکِرپامیلہُپ٘ربھگُنھتاسجیِءُ॥੫॥
لفظی معنی:
آس پیاسی ۔ اُمیدوں کی تشنگی ۔ خواہشات کی بھوکی ۔ پیکھو گوپال ۔ خدا کا دیدار کروں۔ میلنہار ۔ ملاپ کرانیکی توفیق رکھنے والا (1) میلے ۔ ملاپ ۔ سانت۔ سکون ۔ تل بل ۔ تل بھر کے وقفے کے لئے ۔ ہر سادھیہہ سرناگتی ۔ الہٰی پاکدامنوں کی پناہ و سایہ۔ آس پجائے ۔ اُمید پوری ہوتی ہے (2) (چھنت) رُت سرد۔ سروی کو موسم ۔ ہر پیاس۔ الہٰی تاہنگ تشنگی ۔ الہٰی وسل و ملاپ کی چاہ و خواہش کھوچنی درسن ۔ دیدار کی تلاش ۔ گن تاس۔ اوصاف کے خزانے ۔ سوکھ سارے ۔ ہر طرح کا آرام و آسائش ۔ دھرگ ۔ پھٹکار ۔ سندر ۔ خوبصورت۔ سجان ۔ دانشمند۔ بیدار۔ چتر۔ چالاک ۔ بیتی ۔ علام ۔ تنا۔ جسم۔ الوکن ۔ دیکھنا۔
ترجمہ (سلوک )
میں الہٰی دیدار کی تلاش کی پیاس میں پھر رہا ہوں کہ کب دیدار پاؤں اے نانک کوئی روحانی رہبر خدا رسیدہ ہی مپا کرانے کی توفیق رکھتا ہے (1) بغیر الہٰی وسل وملاپ کے چین اور کون نہیں رہتا ۔ آوتل بھر کے وقفےکے لئے بھی محال ہے ۔ اے نانک ۔ خدا یافتہ روحانی رہبر کی پناہ و سایہ سے یہ اُمید خواہش پوری ہوتی ہے ( چھنت) سردی کا موسم ماہ اسوج اور کتک سے آغاز ہوتا ہے ۔ اور تب ہی الہٰی دیار کی چاہ پیدا ہتی ہے ۔ کہ اُس اوصاف کے خزانے خدا کا وصل و دیدار حاصل ہو ۔ بغیر خدا وند کریم نہ تو سارے سکون نہ آرام و آسائش کی سمجھ آتی ہے آرائش و سجاوٹ و ریبائش اُن کے لئے داگ اور دھبہ ہے ۔ ان کی زندگی پر ۔ ایک خوبصورت عالم و فاضل کا جسم سانس کےبغیر ہے جیسے ۔ دل میں جہاں کہیں ہر طرف دل میں الہٰی دیدار کی اُمنگ و خواہش ہے ۔ نانک عرض گزارتا ہے ۔ کہ مہربان کرکے اوصاف کے خزانے خدا سے ملاپ کراؤ ۔

سلوک॥
جلنھِبُجھیِسیِتلبھۓمنِتنِاُپجیِساںتِ॥
نانکپ٘ربھپوُرنمِلےدُتیِیابِنسیِبھ٘راںتِ॥੧॥
سادھپٹھاۓآپِہرِہمتُمتےناہیِدوُرِ॥
نانکبھ٘رمبھےَمِٹِگۓرمنھرامبھرپوُرِ॥੨॥
چھنّتُ॥
رُتِسِسیِئرسیِتلہرِپ٘رگٹےمنّگھرپوہِجیِءُ॥
جلنِبُجھیِدرسُپائِیابِنسےمائِیادھ٘روہجیِءُ॥
سبھِکامپوُرےمِلِہجوُرےہرِچرنھسیۄکِسیۄِیا॥
ہارڈورسیِگارسبھِرسگُنھگاءُالکھابھیۄِیا॥
بھاءُبھگتِگوۄِنّدباںچھتجمُنساکےَجوہِجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکپ٘ربھِآپِمیلیِتہنپ٘ریمبِچھوہجیِءُ॥੬॥
لفظی معنی:
جلن ۔ حسد۔ سیتل ۔ ٹھنڈے ۔ پر سکون ۔ اپجی ۔ پیا ہوئی ۔ سانت۔ سکون۔ پورن ۔کامل۔ دتیا۔ دوسرا بن ۔ دویت ۔ غیر سمجھنا۔ بھر انت۔ وہم وگمان ۔ سادھ پٹھائے ۔ پاکدامن بھیجے ۔ رمن رام ۔ خڈا میں محو ومجذوب ۔ بھر پور ۔ جو ہر جگہ بستا ہے ۔ ( چھنت) رت سیسر ۔ سیال ۔ سردی کا موسم ۔ ہر پر گٹے ۔ خدا ظہو ر پذیر ہوا۔ مائیا دھردہ ۔ دنیاوی دولت کا دہوکا ۔ فریب۔ چرن سیوک ۔ خدمتگار پا۔ ڈور ۔ دھاگا۔ سیگار۔ سجاوٹ۔ سبھ رس ۔ سارے لطف و مزے ۔ ابھیویا۔ جس کا راز بھید معلوم نہ ہو سکے ۔ بھاؤ بھگت ۔ پریم پیار۔ بانچھت ۔ چاہنا۔ جوہ ۔ زیر نظر۔ تاک ۔ تیہہ ۔ تب ۔ پریم و چھوہ ۔ پیار سے ۔ جدائی
ترجمہ :
اے نانک۔ جن کا ملاپ کامل خدا سے ہو گیا ۔ غیرورسے محبت مٹ گئی بھٹکن دور ہوئی خوہشات کی جلن دور ہوئی اور دل و جان نےسکون اور ٹھنڈ ک محسوس کی (1) اے نانک خدا نے خود پاکدامنوں خد ا رسید گان کو بھیجا ۔ خدا کسی سے دو رنہیں۔ سب میں بسنے والے خدا کی یادوریاض سے ہر قسم کا وہم وگمان اور خوف مٹ جاتا ہے (چھنت) مگھر پوہ کے مہینے سردی کے موسم میں سردی پڑتی ہے ۔ اس طرح انسان کے دل میں الہٰی نور ظہور ہوتا ہے خواہشات کی آگ بجھتی ہے دیدار ہوتا ہے اور دل سےد نیاوی دولت کی محبت کی فریب اور دہوکے ختم ہوتے ہیں الہٰی سایہ وپناہ میں ( رہنے سے ) رہ کر جس نے خدمت کی اُس کی ثناہ ہی سارے ساز و سجاوٹ و شنگار اور لطف و مزے اُس انسانی عقل و شعور سے بعید اور اُس ایک راز بھرے خدا کی یادوریاض میں الہٰی عشق و محبت کی چاہ و خواہش سے موت کا خوف مٹ جاتا ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ جس نے خدا اپنا ملاپ بخشش کرتا ہے ۔ اس کے دل سے الہٰی پیار جدا نہیں ہوتا۔

سلوک॥
ہرِدھنُپائِیاسوہاگنھیِڈولتناہیِچیِت॥
سنّتسنّجوگیِنانکاگ٘رِہِپ٘رگٹےپ٘ربھمیِت॥੧॥
نادبِنوداننّدکوڈپ٘رِءپ٘ریِتمسنّگِبنے॥
منباںچھتپھلپائِیاہرِنانکنامبھنے॥੨॥
چھنّتُ॥
ہِمکررُتِمنِبھاۄتیِماگھُپھگنھُگُنھۄنّتجیِءُ॥
سکھیِسہیلیِگاءُمنّگلوگ٘رِہِآۓہرِکنّتجیِءُ॥
گ٘رِہِلالآۓمنِدھِیاۓسیجسُنّدرِسوہیِیا॥
ۄنھُت٘رِنھُت٘رِبھۄنھبھۓہرِیادیکھِدرسنموہیِیا॥
مِلےسُیامیِاِچھپُنّنیِمنِجپِیانِرملمنّتجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکنِتکرہُرلیِیاہرِمِلےس٘ریِدھرکنّتجیِءُ॥੭॥
لفظی معنی:
سوہاگنی ۔ خدا پرست ۔ دولت ۔ ڈگمگاتا ۔ بھٹکتا ۔ چیت ۔ دل ۔ سنت ۔ سنجوگی ۔ سنت خدا پرست روحانی رہبر۔ سنجوگی ۔ ملاپ ۔ گریہہ ۔گھر ۔ذہن ۔ من۔ پر گٹے ۔ ظہور پذیر ہوئے ۔ ظاہر ہوئے ۔ میت ۔ دوت ۔ناد۔ نغمے ۔ بنود۔ تماشے ۔ کوڈ۔ رنگینی ۔ انند۔ پر لطف ۔ سکون ۔ سنگ ۔ ساتھ۔ بنے ۔ پریم۔ ۔ من بانچھت۔ دلی خواہش۔ کی مطابق ۔ نام بھنے ۔ الہٰی نام ۔ سچ و حق و حقیقت بیان کرنے پر ۔ (چھینت) ہمکر ۔ برفباری ۔ من بھانی ۔ دل کو پیاری لگتی ہے ۔ گنونت ۔ اوصاف ولاے ۔ منگلو ۔ خوشی کے گیت ۔ من دھائے ۔ دلی دھیان دیا۔ ون ترن ۔ جنگل اور گھاس۔ درسن ۔ دیکھ کر ۔ چھ پنی ۔ خواہش پوری ہوئی ۔ نرمل منت۔ پاک کلام ۔ سریدھر ۔ خدا۔
ترجمہ
(سلوک ) جن خدا پرستوں نے الہٰی عبادت کی دولت حاصل کر لی ۔ دل اُن کا ڈگمگاتا نہیں۔ اے نانک ۔ خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبروں کے ملاپ سے خدا جو انسان دوست ہے دل میں آبسا ۔ پیارے خدا سے محبت بننے ( پر ) ہی نغمے تماشے اور سکون ہے اور دلی خواہش کے مطابق اے نانک نتیجے ملتے ہیں الہٰی نام کی یاد وریاض یعنی سچ حق و حقیقت کو یاد رکھنے سے ۔
چھنت ) برفانی موسم دل کو پیار لگتا ہے ماگھ اور پھگن بااوصاف مہینے ہیں۔ اے ساتھیوں خوشیوں کےگیت گاؤ دل میں خدا بس گیا ہے ۔ جب دل میں خدا بس جاتا ہے اور دل میں اُسکا دھیان ہوجات اہے تو دل پاک و شفاف ہو جاتا ہے اور انسان دیدار سے محو ومجذوب ہوجاتا ہے ۔ غرض یہ کہ جنگل گھاس پھوس ہر طرح ہر یاول نظر آتی ہے جو بھی پاک کلام کی یادوریاض کرتا ہے الہٰی ملاپ پات اہے اور خواہشات پوری ہوتی ہیں۔ نانک عرض گذارتا ہے ۔ کہ اے ساتھیوں ہر روز خوشیاں مناؤ اور خدا وند کریم کا ملاپ پاؤ۔

سلوک॥
سنّتسہائیِجیِءکےبھۄجلتارنھہار॥
سبھتےاوُچےجانھیِئہِنانکنامپِیار॥੧॥
جِنجانِیاسیئیِترےسےسوُرےسےبیِر॥
نانکتِنبلِہارنھےَہرِجپِاُترےتیِر॥੨॥
چھنّتُ॥
چرنھبِراجِتسبھاوُپرےمِٹِیاسگلکلیسُجیِءُ॥
آۄنھجاۄنھدُکھہرےہرِبھگتِکیِیاپرۄیسُجیِءُ॥
ہرِرنّگِراتےسہجِماتےتِلُنمنتےبیِسرےَ॥
تجِآپُسرنھیِپرےچرنیِسربگُنھجگدیِسرےَ॥
گوۄِنّدگُنھنِدھِس٘ریِرنّگسُیامیِآدِکءُآدیسُجیِءُ॥
بِنۄنّتِنانکمئِیادھارہُجُگُجُگواِکۄیسُجیِءُ॥੮॥੧॥੬॥੮॥
لفظی معنی:
جیئہ ۔ زندگی ۔ سہائی ۔ مددگار۔ بھوجل۔ دنیاوی سمندر تار نہار ۔ کامیاب بنانے والے ۔ سبھ تے اوپے ۔ سب سے بلند دجرہ جانیئے ۔ سمجھیئے ۔ نام پیار۔ الہٰی نام سچ و حقیقت سے پیار (1) دیر ۔ بہادر۔ بلہارنے۔ قربان۔ تیر ۔ کنارے (2) چھنت) بر اجت ۔ بستا ہے ۔ سبھ اوپر ے ۔ سبھ سے مقدم ۔ کلیس ۔ جھگڑا ۔ آون جاون ۔ آواگون ۔ تناسخ۔ دکھ ہرے ۔ عذاب مٹے ۔ ہر بھگت ۔ الہٰی پیار۔ پرویس ۔ داخل۔ ہر رنگ ۔ الہٰی پریم ۔ راتے محو۔ سہج ماتے ۔ ذہنی سکون میں محو ومجذوب۔ تج آپ ۔ خودی چھوڑ کر ۔ سرب گن جگدیسرے ۔ سارے اوصاف والے خدا۔ گن تدھ ۔ اؤصاف کا خزانہ ۔ آد۔ آغاز۔ اول ۔ پہلے ۔ ادیس ۔ سجدہ ۔ جھک کر سلام ۔ مئیا دھارہو ۔ مہربانی کرؤ۔ جگ جگ ۔ ہر دور زماں میں۔ ایکویس ۔ ایک جیسا۔
ترجمہ :
سنت زندگی کی کامیابی کے لئے مددگار اور اس دنیاوی زندگی کے سمندر کو کامیاب بنانے میں اور اس پر عبور حاصل کرنے میں مدد دیتے ہیں اور مدد کی توفیق رکھتے ہیں۔ اے نانک۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت سے پیار کرنے والے سب سے افضل شمار ہوتے اور مانے جاتے ہیں (1) جنہوں نے خدا کو سمجھ لیا وہ بہادر ہیں نانک قربان ہے اُن پر انہوں نے دنیاوی سمندر کو عبور کر لیا اور کنارہ پالیا انہوں نے الہٰی یاد وریاض سے (2)
(چھنت) جن کے دل میں مقدم ہے سایہ خدا اُس کے جھگڑے سب مٹ جاتے ہیں۔ اسکا آواگون اور تناسخ مٹ جاتا ہے عذاب دور ہوجاتا ہے ۔ اور الہٰی پیار دل میں بس جاتا ہے ۔ الہٰی پریم پیار میں محو ومجذوب روحانی سکو ن پاتے ہیں اور دل سے تھوڑے سےو قفے کے لئے بھی نہیں بھلاتے ۔ اور خودی چھوڑ سارے اوصاف کے مالک خدا وند کریم کے زیر سایہ بستے ہیں۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ اوساف کے خزانے خدا اور دنیاوی دولت اور قائنات قدرت اور بنیاد اور آغاز علام کو جھک کر سلام و سجدہ کرؤ جو ہمیشہ ایک ہی شکل وصور میں ہے ۔

رامکلیِمہلا੧دکھنھیِاوئنّکارُ
ੴستِگُرپ٘رسادِ॥
اوئنّکارِب٘رہمااُتپتِ॥
اوئنّکارُکیِیاجِنِچِتِ॥
اوئنّکارِسیَلجُگبھۓ॥
اوئنّکارِبیدنِرمۓ॥
اوئنّکارِسبدِاُدھرے॥
اوئنّکارِگُرمُکھِترے॥
اونماکھرسُنھہُبیِچارُ॥
اونماکھرُت٘رِبھۄنھسارُ॥੧॥
لفظی معنی:
اونکار۔ واحد خدا۔ برہما اُتپت ۔ برہما پیدا ہوا۔ اوناکر کیا جن چت۔ جس نے خدا واحد دل میں بسائیا ۔ سیل پہاڑ ۔ جگ ۔ وقت کی تقسیم ۔ وید نرمیئے ۔ دید و جود میں آئے تحریر ہوئے ۔ اُدھرے ۔ کامیاب ہوئے ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ اکھر ۔ لفظ ۔ تربھون ۔ تینوں علاموں ۔ سار۔ تت ۔ حقیقت ۔ بنیاد۔
ترجمہ :
اونکار سے مراد خدا نے برہما پیدا کیا ہے جس نے واحد خدا کی یادوریاض کی دل میں بسائیا ۔ یہ سارا علام اور وقت کی ترتیب و تقیم اس سارے عالم میں بسنے والے خدا سے ہی وجود میں آئے ہیں اس اونکار کے کلام سے ہی انسان بدیوں اور برائیوں سے بچتا ہے اس اونم کے لفظ سے ہی مرید مرشد کامیابی پاتے ہیں۔ اے انسانوں اوتم اکھر سنہو اور سوچو سمجھو خیال آرائی کرؤ ۔ لفظ اوتم تینوں عالموں کی بنیاد ہے اور سارے عالم کا کارساز ہے اور یہ لفظ اُسی کے لئے محصوص ہے ۔

سُنھِپاڈےکِیالِکھہُجنّجالا॥
لِکھُرامنامگُرمُکھِگوپالا॥੧॥رہاءُ॥
لفظی معنی:
جنجالا۔ الجھاؤ ۔ تذبذب ۔ مخصہ ۔ گوپال۔ مالک علام ۔
ترجمہ:
اے پانڈ ے سن یہ الجھاؤ ۔ جھمیلے اور مخمسے کیوں تحریر کر ۔ رہا ہے ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت تحریر کر جو مالک کل عالم ہے ۔

سسےَسبھُجگُسہجِاُپائِیاتیِنِبھۄناِکجوتیِ॥
گُرمُکھِۄستُپراپتِہوۄےَچُنھِلےَمانھکموتیِ॥
سمجھےَسوُجھےَپڑِپڑِبوُجھےَانّتِنِرنّترِساچا॥
گُرمُکھِدیکھےَساچُسمالےبِنُساچےجگُکاچا॥੨॥
لفظی معنی:
سہج ۔ قدرتی طور پر ۔ بلا جہدو ترود ۔ تین بھون ۔ تینوں عالموں میں۔ جوتی ۔ روشنی ۔ الہٰی نور۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ دست ۔ اشیا۔ مراد الہٰی حقیقت۔ مانک موتی ۔ قیمتی ۔ سوجہے ۔ سمجھے ۔ بوجھے ۔ سمجھے ۔ انت۔ آخر۔ نرنتر۔ لگاتار۔ چن ۔ انتخاب کر مراد نیکوں نیک عادات و چال چلن ۔ اپنا ۔ ساچا۔ سچا۔ سچ و حقیقت۔ ساچ سمالے ۔ سچ و حقیقت اپنا دل میں بسا۔ بن ساچے ۔ بغیر سچے خدا کے ۔ جگ کاچا ۔ یہ عالم مٹ جانے ولاا ہے ۔
ترجمہ :
جس خدا وند کریم نے سارا عالم بغیر کسی خاص جہدو ترود سے پیدا کیا ہے اُسی کے نور سے تینوں عالموں میں سارا پھیلاؤ وسعت ہے ۔ یہ نور مرید مرشد کے وسیلے سے حاصل ہوتا ہے ۔ مراد جو مرید ہوکر مرشد کا بتائیا راستہ منتخب کرتا ہے اور اپناتا ہے وہی اس بیش قیمت الہٰی نام پاتا ہے ۔ وہی سوچتا سمجھتا اور پڑھ پڑھ کر سمجھتا ہے کہ خدا کے بغیر اس سارا علام نا پائیدار ہے ۔ خدا ہی صدیوی ہے مرید مرشد دیدار کرتا ہے اور اس صدیوی حقیقت کو دل میں بساتا ہے ۔

دھدھےَدھرمُدھرےدھرماپُرِگُنھکاریِمنُدھیِرا॥
دھدھےَدھوُلِپڑےَمُکھِمستکِکنّچنبھۓمنوُرا॥
دھنُدھرنھیِدھرُآپِاجونیِتولِبولِسچُپوُرا॥
کرتےکیِمِتِکرتاجانھےَکےَجانھےَگُرُسوُرا॥੩॥
لفظی معنی:
دھرم دھرے ۔ فرض شناشی کی نصیحت کرتا ہے ۔ دھر ماپر ۔ فرض شناشی کی بستی میں مراد خدا رسیدہ فرض شناسوں کی صحبت و قربت میں۔ گن کاری ۔ اوصاف ساز۔ من دھیرا۔ دل کی تسلی ہوتی ہے ۔ مکھ چہرے ۔ مستک ۔ پیشانی ۔ کنچن ۔ سونا۔ منور۔ بوسیدہ لوہا۔ دھرنیدھر ۔ زمین کا سہارا خدا۔ اجوتی ۔ پیدائش سے مبرا۔ تول بول۔ وز و کلام۔ سچ پورا ۔ صدیوی کامل ۔ کرتے ۔ کار ساز۔ مت ۔ مقدار ۔ کے جانے یا جانتا ہے ۔ گر سور ۔ بہادر مرشد
ترجمہ :
جب جائے فرض شناسی میں فرض شناسی کی واعظ و نصیحت کی جائے تو اس اوصاف کرنے والے کے دل کو تسکین ملتا ہے جس کے چہرے اور پیشانی پر ایسی واعظ کرنے والے کے پاوں کی دہول پڑتی ہے تو وہ بوسیدہ لوہا سے سونے بن جانے کے مترادف ایک بدکار بد چلن سے نیک اور با اوصاف شخص میں تبدیلی ہوجاتا ہے ۔ا یسا مالک عالم آپ پیدائش سے مبر اور وز و کلام میں کامل اور صدیوی ہے کارساز علام کرتار کی قدر وقیمت خود کارساز کرتا رہی جانتا ہے ۔ یا بہادر سمجھتا ہے ۔

گنِْیانُگۄائِیادوُجابھائِیاگربِگلےبِکھُکھائِیا॥
گُررسُگیِتبادنہیِبھاۄےَسُنھیِئےَگہِرگنّبھیِرُگۄائِیا॥
گُرِسچُکہِیاانّم٘رِتُلہِیامنِتنِساچُسُکھائِیا॥
آپےگُرمُکھِآپےدیۄےَآپےانّم٘رِتُپیِیائِیا॥੪॥
لفظی معنی:
گیان ۔عالم ۔ سمجھ ۔ دوجا بھائیا۔ دوری محبت کیو جہ سے ۔ گر بھ گلے ۔ غرور اپنا کر ۔ وکھ کھائیا۔ پرائی یا بندی اپنائی ۔ گر رس۔ لطف مرشد۔ گیت ۔ نغمے ۔ باد۔ فضول۔ باھوے ۔ سنیے ۔ چہاتا ۔ نہیں سننا ۔ گہر گنبھیر گوائیا۔ نہایت سنجیدہ ۔ کھوئیا ۔ گر سچ کہیا۔ مرشد نے سچھی نصیحت کی ۔ انمرت لہیا۔ جس سے آب حیات حاصل ہوا ۔ من تن ۔ دل و جان۔ ساچ سکھائیا۔ سچے صدیوی خدا سے محبت ہوئی ۔ آپے گورمکھ ۔ خود ہی ہے ۔ مرید مرشد۔ آپے دیوے ۔ خود ہی ہے دینے والا ۔ انمرت ۔ پیائیا ۔ خود ہی آبحیات پلاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس نے حقیقت اور علم گنوا کر دوسروں سے کی محبت و غرور میں ملوث بدیوںا و ر برئیوں میں ملوث رہا اور دل میں بساتا ہے ۔ الہٰی مرشدی نغمے فضول سمجھتا ہے سننا نہیں چاہتا اور سنجیدگی اور گہری سوچ سمجھ گنوا لیتا ہے جو مرشد کے وسیلے سے سچے خدا کی حمدوثناہ کرتا ہے ۔ وہ آبحیات مراد روحانی واخلاقی زندگی پاتا ہے ۔ دل و جان سے صدیوی سچے خدا سے محب ہوجاتی ہے ۔ مگر یہ خو دہی مرشد کے وسیلے سے بخشش کرتا ہے اور خود ہی آبحیات جسے انسانی زندگی روحای واخلاقی ہوجاتی ہے الہٰی نام سچ حق و حقیقت بخشش کرتا ہے ۔

ایکوایکُکہےَسبھُکوئیِہئُمےَگربُۄِیاپےَ॥
انّترِباہرِایکُپچھانھےَاِءُگھرُمہلُسِجنْاپےَ॥
پ٘ربھُنیڑےَہرِدوُرِنجانھہُایکوس٘رِسٹِسبائیِ॥
ایکنّکارُاۄرُنہیِدوُجانانکایکُسمائیِ॥੫॥
لفظی معنی:
ایکو ایک ۔ صرف واحد ۔ ہونمے گربھ دیاپے ۔ خودی اور تکبر بستا ہے ۔ انتر باہر۔ ذہن ومن اور بیرونیط ور پر ۔ ایو ۔ اس طرح سے ۔ محل ۔ٹھکانہ ۔ سنبھاپے ۔ پہچان ہوتی ہے ۔ نیڑے ۔ نزدیک ۔ حاضر ۔ سرسٹ سبائی ۔ سارا عالم۔ ایکنکار ۔ واحد کار ساز ۔ اور دیگر ۔ دوسرا۔ ایک سمائی ۔ واحد بستا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یوں تو ہر شخص خدا خدا پکارتا ہے ۔ مگر ذہن میں خودی اور تکبر بس رہتا ہے ۔ اگر اندرونی طور پر مراد ذہن و قلب میں بھی خدا بسے جس طرح سے بیرونی طور پر خدا خدا پکارتا ہے تبھی الہٰی حقیقت اور ٹھکانے کی پہچان ہو سکتی ہے ۔ خدا تمہارے ساتھ اور پاس ہے دور نہ سمجھو سارے عالم میں بس رہا ہے اے نانک اس کے علاوہ نہیں کوئی دوسرا۔

اِسُکرتےکءُکِءُگہِراکھءُاپھرِئوتُلِئونجائیِ॥
مائِیاکےدیۄانےپ٘رانھیِجھوُٹھِٹھگئُریِپائیِ॥
لبِلوبھِمُہتاجِۄِگوُتےاِبتبپھِرِپُچھتائیِ॥
ایکُسریۄےَتاگتِمِتِپاۄےَآۄنھُجانھُرہائیِ॥੬॥
لفظی معنی:
کیئو گیہہ راکھو۔ کسیے پکڑ رکھو۔ اپھر یو ۔ تلیو نہ جائی ۔ نہ پکڑا جا سکتا نہ وزن کیا جا سکتا ہے ۔ مراد دل میں بسائیا نہیں جا سکتا۔ مراد اُس کی عظمت کی قدر قیمت کا انداہ نہیں کیا جا سکتا۔ مائیا کے دیوانے د نایوی دولت کے مشتاق ۔ چھوٹ ۔ تھگوڑی پائی ۔ جھوت اور کفر کے فریب میں دہوکا کھا گئے ۔لب ۔ لطف ۔ لوبھ ۔ لالچ ۔ محتاج ۔ دست نگر ۔ انحصار۔ ضرور۔ وگوتے ۔ ذلیل وخوار ۔ اب تب ۔ ابھی اور پھر دوبارہ ۔ا یک سر یو کے ۔ واھد کی خدمت و عبادت ۔ گت مت ۔ حالت یا حالات کا اندازہ یا پہچان ۔ رہائی ختم ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس کارساز کرتار کو کیسے دل میں بسائیا جا سکتا ہے مراد جب دل میں خودی اور تکبر ہو سمائیا ہوا۔ نہ اس کی قدر و منزلت کا اندازہ کیا جا سکتا ہے ۔ اے دنیاوی دولت کے مشتاق انسان جھوٹ اور کفر تجھے دہو کے اور فریب میں گمراہ کر رہا ہےا۔ لفط اور مزے و لالچ دوسروں کا دست نگر محتاج بنا کر ذلیل وخوار کر رہا ہے ۔ ابھی اور بعد میں پچھتائیگا۔ واحد کی ریاضت و عبادت و خدمت سے ہی صورت و حالات زندگی بہتر ہوتے ہیں اور تناسخ مٹتا ہے ۔

ایکُاچارُرنّگُاِکُروُپُ॥
پئُنھپانھیِاگنیِاسروُپُ॥
ایکوبھۄرُبھۄےَتِہُلوءِ॥
ایکوبوُجھےَسوُجھےَپتِہوءِ॥
گِیانُدھِیانُلےسمسرِرہےَ॥
گُرمُکھِایکُۄِرلاکولہےَ॥
جِسنودےءِکِرپاتےسُکھُپاۓ॥
گُروُدُیارےَآکھِسُنھاۓ॥੭॥
لفظی معنی:
آچار۔ چالن چلن ۔ اخلاق۔ رنگ ۔ پریم ۔ روپ ۔ شکل و صورت ۔ اسروپ ۔ اُسی کی ہی شکل و صورت ۔ بھور ۔ روح ۔ نور ۔ بھولے ۔ بستا ہے ۔ تیہہ لوئے ۔ تینوں عالموں میں۔ بوجھے ۔ سمجھتا ہے ۔ سوجھے ۔ سمجھے ۔ پت ۔ عزت۔ گیان ۔ دھیان۔ع لم توجہی ۔ سمسر ۔ یکساں ۔ برابر۔ ورلا ۔ کوئی لہے ۔ پاتا ہے ۔ کرپا ۔ رحمت ۔ مہربانی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے پنڈت ۔ اے انسانوں خدا کی واحد شکل وصورت و پریم اور کام ہے ہو ا پانی اور آگ اُسی کی ہی شکل وصورت ہے اور تینوں عالموں میں اُسی کی نور کی روشنی پھیلی ہوئی ہے ۔ ایک بوجھے سوبھے پت ہوئے مراد اُس واحد خدا کی وحدت کو سمجھنے اور سوجھ ہونے سے وقار اور عزت و حشمت حاصل ہوتی ہے ۔ ایسا علم اور سمجھ سو چ اور دھیان لگا کر مرشد کے وسیلے سے اُیسی زندگی کوئی ہی متوازن زندگی بسر کتا ہے ۔ جو کرتا ہےو ہ الہٰی ملا پ پا لیتا ہے ۔ جسے خڈا اپنی کرم و عنایت سے بخشش کر دیتا ہے وہ مرشد کے ذریعے سناتا ہےا ور آرام و آسائش پاتا ہے ۔

اوُرمدھوُرمجوتِاُجالا॥
تیِنِبھۄنھمہِگُرگوپالا॥
اوُگۄِیااسروُپُدِکھاۄےَ॥
کرِکِرپااپُنےَگھرِآۄےَ॥
اوُنۄِبرسےَنیِجھردھارا॥
اوُتمسبدِسۄارنھہارا॥
اِسُایکےکاجانھےَبھیءُ॥
آپےکرتاآپےدیءُ॥੮॥
لفظی معنی:
اُورم ۔ لہر۔ دہورم ۔ دہول ۔ مٹی ۔ جوت۔ اُجالا۔ نور ۔ روشنی ۔ اُگویا ۔ ظاہر۔ ظاہر ہوکر۔ اسروُپ ۔ اپنی شکل و صورت ۔ اپنے گھر۔ مراد اپنے مکان انسانی قلب و ذہن۔ اُونو ۔ جھک کر ۔ نیبھر دھار۔ لگاتار موسلادھار ۔ اوتم ۔ بلند عظمت۔ اُوتم سبد۔ مخصوص کلام ۔ سوارنہارا۔ درست ۔ کرنے کی توفیق رکھنے والا۔ بھیو ۔ راز۔ بھید۔ کرتا۔ کارساز کرنے والا۔ دیو ۔ دینے والا۔ سخی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
زمین وآسامن اور سمندر روشن ہیں اور تینوں عالم اُسی الہٰی نور سے ۔ ظاہر طور ہر جسے اپنے شکل وصورت دکھاتا ہے ۔ وہ ذہن نشین ہوجاتا ہے ۔ اُس کے ذہن و قلب میں آبحیات جھک کر موسلادھار برستا ہے ۔ بلند عظمت مخصوص کلام کی صورت میں جو طرز زندگی کو درست کرنے کی توفیق رکھتا ہے ۔ اس وحدت کا وہ راز و بھید سمجھتا ہے کہ خڈا ہی کار ساز کرتا ر ہے اور خو دہی طر ز زندگی سکھانے والا اور نعمتیں بخشنے والا سخی داتار ہے ۔

اُگۄےَسوُرُاسُرسنّگھارےَ॥
اوُچءُدیکھِسبدِبیِچارےَ॥
اوُپرِآدِانّتِتِہُلوءِ॥
آپےکرےَکتھےَسُنھےَسوءِ॥
اوہُبِدھاتامنُتنُدےءِ॥
اوہُبِدھاتامنِمُکھِسوءِ॥
پ٘ربھُجگجیِۄنُاۄرُنکوءِ॥
نانکنامِرتےپتِہوءِ॥੯॥
لفظی معنی:
اُگوتے سور۔ جب سورج چڑھتا ہے ۔ مراد جب الہٰی نام حق سچ و حقیقت کا علم روشن ہوتا ہے ۔ اسر۔ دینت۔ برائیاں۔ بدیاں۔ بدکاریاں۔ سنگھارے ۔ ختم کر دیتا ہے ۔ اوچو دیکھ ۔ دور اندیشنی ۔ سبد وچارے ۔ تو کلام کو سوچتا سمجھتا اور خیال کرتا ہے ۔ اوپر ۔ ان سے بلند۔ آدانت ۔ اول و آخر۔ پتیہہ لوئے ۔ تینوں عالموں میں۔ کتھے سنے ۔ کہتا اور سنتا ہے ۔ سوئے ۔ وہی ۔ بدھاتا۔ منصوبہ ساز ۔ کار ساز۔ من مکھ سوئے ۔ ذہن وزبان پر وہی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب انسان اپنی عقل و ہوش سے قائم اور ذہن علم و عمل سے پور نور ہو جاتا ہے تو انسان اپنی برائیوں اور بدکاریوں کو ختم کر دیتا ہے دور اندیشی بلند نظریے اور اونچے خیالوں سے کلام کو سوچتا سمجھتا اور خیال آرائی کرکے راستہ زندگی طے کرتا ہے اور اپناتا ہے کہ اول و آخر تینوں عالموں میںا ُسی کا نور ظہور ہے اور دیدار پاتا ہے وہی کار ساز کرتار کہتا و سنتا ہے وہی منصوبہ ساز اسے زندگی ذہن و زبان بخشنے والا ہےا ور زبان پر بھی وہی ہے وہیس ارے عالم کی زندگی ہے اس کے علاوہ اس طرح کی دنیا میں کوئی دوسری ہستی نہیں ہے ۔ اے نانک۔ الہٰی نام حق سچ و حقیقت اپنانے سے آبرو عزت اور عظمت نصیب ہوتی ہے ۔

راجنرامرۄےَہِتکارِ॥
رنھمہِلوُجھےَمنوُیامارِ॥
راتِدِننّتِرہےَرنّگِراتا॥
تیِنِبھۄنجُگچارےجاتا॥
جِنِجاتاسوتِسہیِجیہا॥
اتِنِرمائِلُسیِجھسِدیہا॥
رہسیِرامُرِدےَاِکبھاءِ॥
انّترِسبدُساچِلِۄلاءِ॥੧੦॥
لفظی معنی:
ہتکار۔ پریم ۔ پیار۔ رن ۔ میدان جنگ۔ لوجھے ۔ لڑائی کرتا ہے ۔ منوآ مار۔ اپنے من کو قابو کرکے ۔ رات و ننت۔ روز و شب۔ رنگ راتا۔ پریم پیار میں محو ومجذوب۔ تین بھون۔ تینوں عالم ۔ جگ چارے ۔ چاروں زمانے کے دوروں میں ۔ جاتا ۔ پہچان۔ جن جاتا سو تس ہی جیہا۔ جس نے اپنے پہچان لیا اس ہی جیسا ہوگای۔ ات نر مائل ۔ نہایت پاک و مقدس ۔ سیبھس دیہا۔ اُس کی جسم او ر زندگی کامیاب ہوجاتی ہے رہسی ۔ رہتا ہے ۔ رام ردے ۔ خدا ذہن نشین ۔ اک بھائے ۔ا یک سی محبت کے ساتھ ۔ لگاتار۔ اننتر سبد۔ لد میں کلام ساچ لو لائے ۔ سچ مراد صدیوی سچے خدا سے محبت کے ساتھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دل میں خدا سے محبت ہو گئی اور محبت مین محود محو ومجذوب ہو گیا وہ اپنے قلب پر قابو پا کر برائیوں کے خلاف لڑائی یا جنگ کرتا ہے اور روز و شب الہٰی پریم پیار میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔ جو تینوں عالموں اور چاروں زمانوں میں ہے ۔ جس کی پہچان جس نے اُسے پہچان لیا وہ اُس ہی جیسا ہو گیا وہ نہایت پاک و مقدس ہوجاتا ہے اور جسمانی طور پر نہایت کامیاب اس کےد ل میں لگاتار خڈا بستا ہے ۔ اس کے دل میں کلام الہٰی خدا سے محبت بنی رہتی ہے ۔

روسُنکیِجےَانّم٘رِتُپیِجےَرہنھُنہیِسنّسارے॥
راجےراءِرنّکنہیِرہنھاآءِجاءِجُگچارے॥
رہنھکہنھتےرہےَنکوئیِکِسُپہِکرءُبِننّتیِ॥
ایکُسبدُرامنامنِرودھرُگُرُدیۄےَپتِمتیِ॥੧੧॥
لفظی معنی:
روس ۔ غصہ ۔ انمرت پیجے ۔ آبحیات پیو۔ رابے ۔ حکمران ۔ رائے ۔ امیر ۔ وزیر ۔ سردار۔ رنگ ۔ کنگال ۔ نادار۔ آئے جائے ۔ جو آتا ہے چلا جاتا ہے ۔ مراد جو آتا ہے فوت ہو جاتا ہے ۔ رہن کہن نے ۔ کسی کے نہیں رہنا کہنے پر ۔ بینی ۔ گذارش۔ عرض ۔ نرودھر ۔ جسکا کوئی بدل نہیں جس کے برابر نہیں۔ پت منی ۔ عزت و آبرو۔ و دانمندی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان خدا پر اعتراج نہ کر الہٰی نام کا آبحیات حق سچ و حقیقت نوش کر کیونکہ یہ دنیا صدیوی رہائش کے لئے نہیں ہے ۔ نہ یہاں حکمرانوں امیروں وزوں اور کنگالوں نے رہنا ہے ۔ جو پیدا ہوا ہے اُ س نے آخر یا اول فو ت ہو نا ہے ۔ لہذا اس کے لئے کس پاس عرض گذاری جائے واحد کلام الہٰی نام حق سچ و حقیقت ہی واحد وسیلہ ہے ۔ جو برائیون بدکاریوں سے بچاتا ہے ۔ مرشد عزت و عقل یہی دیتا ہے ۔

لاجمرنّتیِمرِگئیِگھوُگھٹُکھولِچلیِ॥
ساسُدِۄانیِباۄریِسِرتےسنّکٹلیِ॥
پ٘ریمِبُلائیِرلیِسِءُمنمہِسبدُاننّدُ॥
لالِرتیِلالیِبھئیِگُرمُکھِبھئیِنِچِنّدُ॥੧੨॥
لفظی معنی:
لاج ۔ حیا ۔ شرم۔ لاج مرنتی ۔ حیا ختم ہو گئی ۔ مر گئی ۔ گھونگھٹ ۔ پردہ ۔ کھول۔ اُٹھا۔ ساس۔ مراد لا علمی ۔ دیونای ۔ بادری ۔ پاگل ۔ جھلی ۔ سنک ۔ ہٹک۔ رکاوٹ۔ ٹلی ۔ دور ہوئی ۔ پریم بلائی ۔ پیار بھرا بلاو۔ رتی سیو ۔ خوشیوں سے ساتھد یا۔ سبد انند۔ کلام کا سکون۔ لعل رتی لای بھئی ۔ سر خرو ہوئی ۔ نچند۔ بیفکر۔
ترجمہ معہ تشریح:
دنیاوی حیا و شرم کا دکھاوا چھوڑ کر شارع عام راہ اختیار کر لیا۔ اب لا علمی ختم ہوگئی اور اُس کی رکاوٹ و در ہوئی ۔ الہٰی پیار بھر بلاوے پر بخوشی تمام دل میں سبق مرشد سے سکون ہوا سر خروئی سے سر خرو ہوا مرید مرشد ہوکر بیفکر ہوا۔

لاہانامُرتنُجپِسارُ॥
لبُلوبھُبُرااہنّکارُ॥
لاڑیِچاڑیِلائِتبارُ॥
منمُکھُانّدھامُگدھُگۄارُ॥
لاہےکارنھِآئِیاجگِ॥
ہوءِمجوُرُگئِیاٹھگاءِٹھگِ॥
لاہانامُپوُنّجیِۄیساہُ॥
نانکسچیِپتِسچاپاتِساہُ॥੧੩॥
لفظی معنی:
لاہا۔ منافع۔ نفع۔ نام ۔ الہٰی نام ۔ سچ حق و حقیقت ۔ جپ ۔ یاد۔ سار ۔ بنیاد۔ اصل۔ لب۔ لطف ۔ مزے ۔ لوبھ ۔لالچ۔ اہنکار۔ غرور ۔ تکبر۔ لاڑی چاڑی ۔ دل کو دکاھنے ولای محسوس ہونے والی بات۔ لا اعتبار۔ بغض ۔ چگلی ۔ برائی ۔ منمکھ ۔ مرید من ۔ خودی پسند۔ مگدھ ۔ جاہل۔ نادان۔ گنوار۔ جاہل۔ لاہے ۔ نفع کمانے کے لئے ۔ کارن ۔ سبب۔ وجہ ۔ ہوئے مجور ۔ وقتی مزدور۔ ٹھگائے ٹھگ ۔ ٹھگ نے ٹھگ لیا۔ لاہا نام ۔ سچ و حقیقت کا نفع۔ پونجی ۔ سرمایہ۔ ویسا ہو۔ یقین ۔ پت ۔ عزت۔ سچا پاتسا ہو ۔ صدیوی سچا خدا۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی بیش قیمت مقدس الہٰی نام ہی الہٰی یاد وریاض کی بنیاد و حقیقت ہے ۔ لطف مزے لالچ غرور اور تکبر برا ہے اور بغض برائی ۔ خوشامد ۔ چغل خوری بری ہے ۔ خودی پسند مرید من بے علم نا بینا نہایت بے عقل جاہل ہے انسان اس دنیا میں کچھ کمانے اور نفع حاصل کرنے کے لئے آئیا ہے مگر دنیاوی دولت کا غلام ہوکر محبت کی کھیل میں زندگی کے کھیل میں شکست کھا کر جاتا ہے ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت ۔ اور یقین واثق ایک قیمتی سرمایہ ہے ۔ اے نانک۔ سچی عزت و حشمت سچا صدیوی خدا ہے

آءِۄِگوُتاجگُجمپنّتھُ॥
آئیِنمیٹنھکوسمرتھُ॥
آتھِسیَلنیِچگھرِہوءِ॥
آتھِدیکھِنِۄےَجِسُدوءِ॥
آتھِہوءِتامُگدھُسِیانا॥
بھگتِبِہوُناجگُبئُرانا॥
سبھمہِۄرتےَایکوسوءِ॥
جِسنوکِرپاکرےتِسُپرگٹُہوءِ॥੧੪॥
لفظی معنی:
وگوتا ۔ ذلیل وخوار۔ جگ ۔ عالم ۔ دنیا۔ جم پنتھ ۔ موت کا راستہ ۔ مراد روحانی واکلاقی موت کی وجہ سے ۔ آئی نہ میٹن کو سمرتھ ۔ آئی ہوئی اخلاقی و روحانی موت کو کسی میں ختم کرنے کی توفیق نہیں۔ آتھ ۔ دنیاوی دولت۔ سیل ۔ پہاڑ ۔ نیچ گھر۔ بد انسان۔ آتھ دیکھ ۔ سرمایہ اور دولت دیکھر کر ۔ نوے جس دوئے ۔ ہر دو امیر غریب جھکتے ہیں۔ سجدے کرتے ہیں ۔ مگدھ ۔ جاہل۔ بیوقوف ۔ سیانا۔ دانشمند ۔ بھگت دہونا۔ پریم پیا ر سے خالی ۔ بورانا ۔ جھلا ۔ دیوناہ ۔ درتے بستا ہے ۔ ایکو سوئے ۔ وہی واحد خدا ۔ پرگٹ ۔ ظاہر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اخلاقی و روحانی موت ۔ کے راستے پر چلنے کی وجہ سے سارا علام ذلیل و خوار ہوتا ہے ۔ اس د نیا کی خواہش مٹانے کی کسی میں توفیق نہیں یہ دولت اگر کسی نکمے کے گھر میں ہو تو امیر غریب دنوں اُس کے آگے سجد کے کرتے ہیں جھکتے ہیں۔ جس کے پاس سرمایہ یا دولت ہے تو جاہل ۔ اور بیو قوف بھی دانشمند ہے ۔ الہٰی عشق و محبت پیار لاہٰی کے بغیر سارا عالم دیوانا ہو رہا ہے ۔ سب میں واحد خدا بستا ہے ۔ جس پر الہٰی کرم و عنیات ہوتی ہے اسے ظاہر ہوجاتا ہے ۔

جُگِجُگِتھاپِسدانِرۄیَرُ॥
جنمِمرنھِنہیِدھنّدھادھیَرُ॥
جودیِسےَسوآپےآپِ॥
آپِاُپاءِآپےگھٹتھاپِ॥
آپِاگوچرُدھنّدھےَلوئیِ॥
جوگجُگتِجگجیِۄنُسوئیِ॥
کرِآچارُسچُسُکھُہوئیِ॥
نامۄِہوُنھامُکتِکِۄہوئیِ॥੧੫॥
لفظی معنی:
جگ جگ ۔ ہر زمانے میں۔ تھاپ ۔ قائم۔ سدا۔ ہمشہ ۔ نروپر ۔ جس کی کسی سے دشمنی نہیں۔ جنم مرن ۔ موت و پیدائش ۔ دھنداوھیر ۔ کاروباری دوڑ دہو پ۔ اُائے ۔ پیدا کرکے ۔ گھٹ تھاپ ۔ ( اس میں۔ اُسے قائم کرتا ہے ۔ اگو چر۔ جسے بیان نہ کیا جا سکے ۔ لوئی ۔ لوگ۔ جوگ ۔ جگت۔ الہٰی ملاپ کا طریقہ ۔ جگجیون ۔ عالم کی زندگی ۔ سوئی ۔ وہی ۔ آچار۔ اخلاق۔ چلن ۔سچ۔ حقیقت۔ اصلیت ۔ آچار سچ ۔ اپنا چال چلن ۔ نیک سچ و حقیقت کی مطابق بنا۔ نام دہونا۔ سچ و حقیقت کے بغیر ۔ مکت کو ۔ آزادی کیسے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو ہر وقت ہر زمانے میں پیدا کرکے خود بلا دشمنی ہے ۔ جو موت و پیدائش سے مبرا ہے نہ اُسے کسی کاربار مین دوڑ دہوپ ہے اور خود ہی عالم پیدا کرکے خود ہی نگراں ہے ۔ آپ بیان سے بعید ہے جبکہ عالم کاروبار میں مشغول ہے ۔ جبکہ جو کچھ نظر آرہا ہے ۔ وہ الہٰی پھیلاؤ ہی ہے وہ انسان کو زندگی گذارنے کا طریقہ کار د نیا میں رہنے کے لئے سکھاتا ہے ۔ اس لئے اپنا اخلاق چال چلن سچ حق و حقیقت پر مبنی بنا ۔ اس سے آڑام و آسائش حاصل ہوتا ہے ۔ خدا کے نام سچ حق و حقیقت کے بغیر اخلاقی و زہنی آزادی حاصل نہیں ہو سکتی ہے ۔

ۄِنھُناۄےَۄیرودھُسریِر॥
کِءُنمِلہِکاٹہِمنپیِر॥
ۄاٹۄٹائوُآۄےَجاءِ॥
کِیالےآئِیاکِیاپلےَپاءِ॥
ۄِنھُناۄےَتوٹاسبھتھاءِ॥
لاہامِلےَجادےءِبُجھاءِ॥
ۄنھجُۄاپارُۄنھجےَۄاپاریِ॥
ۄِنھُناۄےَکیَسیِپتِساریِ॥੧੬॥
لفظی معنی:
بن ناوے ۔ الہٰی نام کے بغیر یعنی سچ حق و حقیقت کے بغیر انسان ۔ خودی پسند ۔ بلاپا بندی ۔ کائے من پیر ۔ دلی درد مٹانے کے لئے ۔ یکو ہ میلہہ۔ ملاپ ک یوں کیا جائے ۔ وات۔ راستہ ۔ وٹاؤ۔ راہگیر ۔ توٹا ۔ گھاٹا کسی ۔ لاہا ۔ منافع۔ بجھائے ۔ سمجھ ۔ ونج ۔ سوداگری ۔ ونجے ۔ سوداگری کرتا ہے ۔ پت ساری ۔ حقیقی اصلی عزت۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام سچ حق و حقیقت کے بغیر روحانی و اخلاقی زندگی سے انسان اسے اپنانے ملاپ کرکے ذہنی اور قلبی کوفت دور نہیں کرتا ۔ انسان اس دنیا میں ایک راہگیر اور مسافر اپنی مسافت کا راستہ طے کرنے کے لئے آئیا ہےا ور اخر چلا جاتا ہے ۔ لہذا کیا لیکے آئیا اور کیا ساتھ لیجائیگا۔ بغیر سچ و حقیقت نہ آپنا کر بغیر کچھ کامئے گھاٹا رہتاہ ے ۔ منافع تب ہوتا ہے جب خدا کے بغیر جو دوسرے بیو پار یا خرید و فروخت کرتا ہے اس سے اس کی شہرت اور حقیقی عز ت نہیں بنتی ۔

گُنھۄِچارےگِیانیِسوءِ॥
گُنھمہِگِیانُپراپتِہوءِ॥
گُنھداتاۄِرلاسنّسارِ॥
ساچیِکرنھیِگُرۄیِچارِ॥
اگماگوچرکیِمتِنہیِپاءِ॥
تامِلیِئےَجالۓمِلاءِ॥
گُنھۄنّتیِگُنھسارےنیِت॥
نانکگُرمتِمِلیِئےَمیِت॥੧੭॥
لفظی معنی:
گن وچارے ۔ جو اوصاف سمجھتا ہے وہی ۔ گیانی ۔ با علم ۔ علام ۔ سوئے ۔ وہی ۔ گن ۔ وصف۔ گیان ۔ علم ۔ پہچان۔ سمجھ ۔ پراپت ۔ حاصل ۔ گن داتا۔ اوصاف بخشنے والا۔ درلا ۔ کو ئی ہی ۔ شاذو نادر۔ ساچی کرنی ۔ حقیقی اعمال ۔ گر و چار۔ خیالات مرشد۔ اگم ۔ ایسی ہستی جو انسانی عقل و ہوش سے بعید ہے ۔ اگوچر۔ جو بیان نہ ہو سکے ۔ قیمت نہیں پائے ۔ قدر نہیں پے سکتی ۔ گنونتی ۔ با اوصاف ۔ وصفوں ولاا۔ گن سارے ۔ اوصاف قائم رکھنا۔ نیت ۔ ہر روز۔ گرمت ۔ سبق مرشد ۔ میلئے میت۔ اے دوست دیدا ر و وصل نصیب ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس شخص کو اوصاف کی سمجھ آتی ہے وہی با علم عالم ہوتا ہے اوصاف سے ہی علم و دانش حاصل ہوتی ہے ۔ مگر ایسےا نسان بہت کم اور تھوڑے ہیں دنیا میں جو اصواف عنایت کرئے ۔ سچے اعمال سبق مرشد سے حاصل ہوئے ہیں ( خدا ) انسانی عقل و ہوش سے بلند و بعید ہے ۔ جو نہ بیان ہو سکتا ہے نہ اُس کی قدو منزلت پائی جا سکتی ہے ۔ اسکا ملاپ تبھی حاصل ہو سکتا ہے اگر خدا خود ملائے ۔ بااوصاف شخص ہی ہمیشہ اوصاف یا د رکھتا اور سنبھالتا و بساتا ہے ۔ اے نانک ۔ سبق مرشدسے دوست خدا کا وصل و دیدار ہو سکتا ہے ۔

کامُک٘رودھُکائِیاکءُگالےَ॥
جِءُکنّچنسوہاگاڈھالےَ॥
کسِکسۄٹیِسہےَسُتاءُ॥
ندرِسراپھۄنّنیِسچڑاءُ॥
جگتُپسوُاہنّکالُکسائیِ॥
کرِکرتےَکرنھیِکرِپائیِ॥
جِنِکیِتیِتِنِکیِمتِپائیِ॥
ہورکِیاکہیِئےَکِچھُکہنھُنجائیِ॥੧੮॥
لفظی معنی:
شہوت۔ کام ۔ کرؤدھ ۔ غصہ ۔ کائیا۔ جسم۔ گائے ۔ کمزور کرتا ہے ۔ کنچن ۔ سونا۔ سوہاگاڈھاے ۔ نرم بنا دیتا ہے ۔ کس کسوٹی ۔ کسوٹی پر گھسانا۔ سہے ۔ برداشت ۔ تاؤ ۔ گرمی ۔ ندر صراف۔ صراف کی نظر میں ۔ صراف۔ سونے چاندی کا سوداگر ۔ وتی ۔ ونگی ۔ رنگ۔ سچڑاؤ۔ حقیقی سچی ۔ اصلی حالت میں ۔ جگت ۔د نیا ۔ عالم ۔ پسو۔ حیوان بے سمجھ ۔ اہا ۔ کال ۔ خودی تکبر اور موت۔ کسائی ۔ قساب ۔ کر ۔ ہاتھ ۔ کرتے ۔ کرنے والا۔ کار ساز۔ کرنی ۔ اعملا۔ کر پائی ۔ کے ذمے لگائی ۔ ذمے داری ۔ فرض عائد کیا ہے ج۔ جن کسی جو اعمال کرتا ہے ۔ تن قسمت پائی ۔ وہ اُسکا نتیجہ پھل پاتا ہے ۔ قسمت ۔ قدر و منزلت ۔ کچھ کہن نہ جاتی ۔ کوئی غلط فہمی نہیں ہو سکتی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے سوہاگا سونے کو کھٹئی میں ڈالنے پر نرم بنا دیتا ہے ایسے ہی شہوت اور غصہ انسانی جسم کو کمزور بناتا ہے ۔ تب ہی شہوت اور غصہ انسانی جسم کو کمزور ناتا ہے ۔ تب کسوٹی پر جب گھسائای جاتا ہے اور تاؤ آگ کی تیزی برداشت کرتا ہے تب صراف کی نظر میں ٹھیک اور قابل قبول ہوتا ہے ۔ عالم ایک حیوان کی مانند ہو رہاہ ے ۔ خودی اور موت اس کے لئے قصاب بنے ہوئے ہیں ۔ کار ساز کرتار نے ایک اصول بنا دیا ہے کہ جیسی کار یا اعمال کوئی کرات ہے ویسا ہی نتیجہ یا پھل پاتا ہے ۔ مگر جس کا رساز کرتار ے یہ اصول طے کیا ہے وہی اس کے قدرو منزلت کو سمجھتا ہے ۔ اس کے متعلق کوئی نکتہ چینی نہیں ہو سکتی ۔

کھوجتکھوجتانّم٘رِتُپیِیا॥
کھِماگہیِمنُستگُرِدیِیا॥
کھراکھراآکھےَسبھُکوءِ॥
کھرارتنُجُگچارےہوءِ॥
کھاتپیِئنّتموُۓنہیِجانِیا॥
کھِنمہِموُۓجاسبدُپچھانِیا॥
استھِرُچیِتُمرنِمنُمانِیا॥
گُرکِرپاتےنامُپچھانِیا॥੧੯॥
لفظی معنی:
کھما۔ برداشت ۔ کھوجت کھوجت ۔ تلاش کرتے کرتے ۔ انمرت۔ آبحیات۔ ایسا پانی جس سے زندگی صدیوی طور پر روحانی واخلاقی طور پر درست ہو جاتی ہے ۔ من ستگر دیا ۔ اپنے دل کو مرشد کےس بق کا گرویدہ بنا ئیا ۔ گھرا کھرا۔ اچھا اچھا۔ سبھ کوئے ۔ سارے ۔ کھات پیئت ۔ دنیاوی لطف لیتے ہوئے ۔ موئے ۔ مراد اخلاقی و روحانی موت ہوگئی ۔ نہیں جانیا نہیں۔ سمجھے ۔ کھن میہہ۔ پل ہی میں ۔س بد پچھانیا۔ کلام کو سمجھا۔ استھر چیت۔ مستقل مزاج۔ مرن من مانیا۔ خودی مٹانا دل نے چاہیا۔ نام پچھانیا۔ سچ اور صدیویس چ کی پہچان کی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو شخص ڈوہنڈ ڈہونڈ کر جستجو سے آبحیات پیتا ہے اپنے آپ کو پہچان یعنی طرز زندگی روحانی و اخلاقی بناتا ہے وہ ہے اور مرید مرشد ہوجاتا ہے ہر انسان اس کے سچے اخلاق کی تعریف کرتا ہے ۔ وہ ہمیشہ کے لئے خوش اخلاق ہو جاتا ہے ۔ جو کھانے پینشے میں مشغول رہتے ہیں ۔ و ہ روحانی واخلاقی موت مر جاتے ہیں۔ مگر جب سبق و واعظ کی پہچان اور سمجھ آجاتی ہے ۔ تو خودی مٹا دیتے ہیں وہ مستقل مزاج ہوجاتے ہیںا ور خود مٹانے میں خوشی محسوس کرتے ہیں ۔ رحمت مرشد سے سچ و حقیقت الہٰی نام کی پہچان کر لیتے ہیں۔

گگنگنّبھیِرُگگننّترِۄاسُ॥
گُنھگاۄےَسُکھسہجِنِۄاسُ॥
گئِیانآۄےَآءِنجاءِ॥
گُرپرسادِرہےَلِۄلاءِ॥
گگنُاگنّمُاناتھُاجونیِ॥
استھِرُچیِتُسمادھِسگونیِ॥
ہرِنامُچیتِپھِرِپۄہِنجوُنیِ॥
گُرمتِسارُہورنامبِہوُنیِ॥੨੦॥
لفظی معنی:
گگن ۔ آسمان ۔ گنبھیر ۔ سنجیدہ ۔ مستقل مزاج ۔ گگننتر ۔ اُس خدا میں جو ہر جائی ہے ۔ واس ۔ ٹھکانہ ۔ گن گاوے ۔ حمدوثناہ ۔ سہج نواس۔ روحانی وذہنی سکون ۔ نواس۔ بسنا۔ گیا نہ آوے آئے نہ جائے ۔ موت و پیدائش آواگون ۔ تناسک۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد ۔ لو ۔ محبت ۔ محو و مجذوب۔ گگن اگم۔ جو آسمان کی مانند ہر جائی اور انسانی سمجھ عقل و ہوش سے بعید ہے ۔ اناتھ ۔ جسکا کوئی مالک نہیں۔ استھر چیت ۔ سنجیدہ مستقل مزاج۔ سمادھ سگوتی ۔ با اوصاف دھاین لگانا۔ جونی ۔ اواگون۔ گرمت۔ سبق مرشد۔ سار ۔ حقیقت۔ اسل۔ نام و ہونی ۔ حقیقت سے خالی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو انسان خدا میں ایمان لاتا ہے اور تعین آسمان جتنا سجنجیدہ اور زہن نشین ہونے اور حمدوثناہ کرنےس ے آرام و زہنی و روحانی سکون ملتا ہے تناسخ میں نہیں پڑنا پڑتا ۔ رحمت مرشد خڈا سے محبت میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔ آسمان جتنا بلند انسانی عقل وہوش سے بالا و بعید جو کسی کی ملکیت نہیں جنم و پیداش سے مبرا میں یکسوئی دھیان سنجیدگی اوصاف ہے خدا کو یاد کرتا کہ پھر پیدا نہ ہونا پڑے ۔ سبق و واعط مرشد ہی حقیق و اصلی سمجھ ہے ۔ دوسرے الہٰی نامس چ و حقیقت سے خالی ہیں۔

گھردرپھِرِتھاکیِبہُتیرے॥
جاتِاسنّکھانّتنہیِمیرے॥
کیتےماتپِتاسُتدھیِیا॥
کیتےگُرچیلےپھُنِہوُیا॥
کاچےگُرتےمُکتِنہوُیا॥
کیتیِنارِۄرُایکُسمالِ॥
گُرمُکھِمرنھُجیِۄنھُپ٘ربھنالِ॥
دہدِسڈھوُڈھِگھرےَمہِپائِیا॥
میلُبھئِیاستِگُروُمِلائِیا॥੨੧॥
لفظی معنی:
تھا کی ۔ ماند ہوئی ۔ مراد بہت سی زندگیاں پاکر ماند ہوگئی ۔ اسنکھ ۔ بیشمار۔ انت ۔ آخر مت ۔ بیٹے ۔ دھیا ۔ بیٹیاں۔ فن ۔ بار بار۔ کاپے ۔ گر ۔ انجان مرشد۔ مکت ۔ نجات۔ کیتی نار۔ کتنی ہی بیویاں۔ در۔ خاوند۔سمال۔سنبھال ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ مرن جیون ۔ زندگی و موت ۔ پربھ نال۔ الہٰی رضا مندی یا رضا میں۔ دہدس ۔ ہر طرف دہونڈ ۔ تلاش۔ گھر ے ماہے ۔ دلمیں۔ میل بھئیا۔ ملاپ ہوا۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب بیشمار زندگیاں پپاکر ماند پڑ گیا یااتنے در دروازے پر گیا کہ ماند پڑ گیا ایتنے زیاہ جنکا شمار نہیں ہو سکتا ۔ کتنے ہی مان۔ باپ بیٹے بیٹیاں ہوئیں اور کتنی ہی بیویاں ہوئیں مگر خاوند سب کا ایک ہے مراد سب کا مالک ہے ۔ واحد خدا ۔ کتنے مرید اور مرشد ہوئے ہیں۔ انجان خام مرشد نجات نہیں دلا سکتا ۔ مرید مرشد کی زندگی اور موت کا انحصار اور اُمید خدا پر ہے ۔ ہر طرف جستجو کرنے پر آکر اپنے اند دل میں پائیا ملاپ ہوا اور سچے مرشد نے ملائیا۔

گُرمُکھِگاۄےَگُرمُکھِبولےَ॥
گُرمُکھِتولِتد਼لاۄےَتولےَ॥
گُرمُکھِآۄےَجاءِنِسنّگُ॥
پرہرِمیَلُجلاءِکلنّکُ॥
گُرمُکھِنادبیدبیِچارُ॥
گُرمُکھِمجنُچجُاچارُ॥
گُرمُکھِسبدُانّم٘رِتُہےَسارُ॥
نانکگُرمُکھِپاۄےَپارُ॥੨੨॥
لفظی معنی:
گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ تول تلاوے توے ۔ آزمائش ا ور پہچان کرتا اور کراتا ہے ۔ نسنگ ۔ بلا جھجک ۔ پرہر ۔ مٹا کر۔ میل ۔ ناپاکیزگی ۔ کلنک ۔ دبھہ ۔ داغ۔ ناد وید و چار۔ مذہبی کتابوں اور سنگیت کو سمجھنے والا ہے ۔ مجن۔ اشنان ۔ غسل۔ چج آجار ۔ بلند اخلاق۔ چال چلن ۔ کور مکھ سبد۔ کلام مرشد انمرت ہے سار ۔ مقدس۔ آبحیات ۔ گورمکھ پاوے پار ۔ مرید مرشد کامیابی دلاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
مرید مرشد ہی کرات ہے حمدوثناہ مرید مرشد ہی اُس کی پہچان کرتا اور قدر وقیمت پاتا اور کتا ہے ۔ مرید مرشد پا بندیوں سے آزاد اس دنیا میں آتا اور چلا جاتا ہے ۔ وہ نا پاکیزگی دور کرکے زندگی کے داغ مٹا چکا ہوتا ہے ۔ الہٰی اوصاف کی سچ سمجھ اور خیال ہی اُس کے لئے سنگیت اور مذہبی کتاب ہے ۔ بلند اخلاق رید مرشد کے لئےز یارت ہے ۔ کلام ہی مرشد کے لئے خاص آب حیات ہے اے نانک مرید مرشد اپنی زندگی کامیاب بناتا ہے ۔

چنّچلُچیِتُنرہئیِٹھاءِ॥
چوریِمِرگُانّگوُریِکھاءِ॥
چرنکملاُردھارےچیِت॥
چِرُجیِۄنُچیتنُنِتنیِت॥
چِنّتتہیِدیِسےَسبھُکوءِ॥
چیتہِایکُتہیِسُکھُہوءِ॥
چِتِۄسےَراچےَہرِناءِ॥
مُکتِبھئِیاپتِسِءُگھرِجاءِ॥੨੩॥
لفظی معنی:
چنچل ۔ شرارتی ۔ چیت ۔ من ۔ ٹھائے ۔ ٹھکانے ۔ پر سکون ۔ چوری مر گ ۔ چھپ کرنفس ۔ انگوری ۔ نئی نئی نعمتیں ۔ چنر کمل۔ پائے پاک ۔ دھارے چیت ۔ دلمیں بسائے ۔ چر حیون۔ لمبی عمر۔ چیتن ۔ ہوشیاری ۔ بیداری ۔ چنتت ۔ فکر مندی ۔ چیتہہ۔ یاد کرئے ۔ تہی ۔ تبھی ۔ چت وسے ۔د لمیں بسے ۔ راجے ہر نائے ۔ الہٰی نا میں محو ومجذوب ہو ۔ پت سیو ۔ با عزت۔ مکت بھئیا ۔ آزاد ہوا ۔ نجات پائی ۔ گھر جائے ۔ واصل بحق ہوا۔
ترجمہ معہ تشریح:
شرارتی دماغ سکون نہیں پاتا اور نفس پوشیدہ طور پر نئے نئے لطف اور مزوں میں مشغول رہتا ہے ۔ نیک اور پاک خیال دل میں بسانے سے لبمی عمر اور بیداری ہوجاتی ہے ۔ اور ہر روز بیداریر ہتا ہے ۔ جدھر نظر ڈالو ہر ادمی فکر مندر دکھائی دیتا ہے ۔ مگر جو واحد خدا کی یاد وریاض کرتا ہے ۔ وہی آرام و سکون پاتا ہے ۔ جس کے دل میں خڈا بس جائے وہ الہٰی نام میں محو ومجذوب ہرکر وہ نجات پاتا ہے اور واصل بحق ہوجاتا ہے ۔

چھیِجےَدیہکھُلےَاِکگنّڈھِ॥
چھییانِتدیکھہُجگِہنّڈھِ॥
دھوُپچھاۄجےسمکرِجانھےَ॥
بنّدھنکاٹِمُکتِگھرِآنھےَ॥
چھائِیاچھوُچھیِجگتُبھُلانا॥
لِکھِیاکِرتُدھُرےپرۄانا॥
چھیِجےَجوبنُجروُیاسِرِکالُ॥
کائِیاچھیِجےَبھئیِسِبالُ॥੨੪॥
لفظی معنی:
چھیجے دیہہ۔ جب جسم ختم ہوتا ہے ۔ کھلے اک گنڈھ ۔ تو ایک راز افشاں ہوتا ہے ۔ چھیانت ۔ خاتمہ ۔ مراد موت ہر روز دیکھتے ہیں۔ دیکھ جگ ہنڈ ۔ دنیا کو غور سے دیکھو ۔ دہوپ چھاؤ ں ۔ غمی ۔ خوشی ۔ ؑذاب و آسائش ۔ سم ۔ برابر ۔ یکساں۔ ایک جیسا ۔ بندھن ۔ غلامی ۔ مکت۔ آزادی۔ نجات۔ چھائیا۔ دنیاوی دولت ۔ چھوچھی ۔ تھوتھی ۔ بیکار۔ جگت بھلانا۔ عالم گمراہ ہے ۔ لکھیا۔ تحریر شدہ ۔ کرت ۔ کئے ہوئے اعمال۔ دھرے ۔ا لہٰی حضور سے ۔ پروانا۔ قبول۔ بھجے جوبن۔ جوانی ڈھلتی ہے ۔ جروا سر کال۔ موت اور بڑھاپا سر پر ہے ۔ بھئی سبال۔ جالے کی مانند ہوجاتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب سانس ختم ہو جاتے ہیں تو جسم کی حرکت بند ہوجاتی ہے ۔ موت کا یہ کھیل دنیا میں دیکھنے میں اتا ہے ۔ جو انسان عذاب و آسائش ایک نظرئے سے ایک سا دیکھتا ہے ۔ وہ دنیاوی نعمتوں کی غلامی سے ناجت پاکر ذہنی آذادی حاصل کر لیتا ہے علام اس کا ساتھ نہ دینے والی دولت میں گمراہ ہو رہا ہے ۔ آغاز زندگی سے ہی اُسکا اعمالنامہ تحریر اور منظور ہوتا ہے ۔ جوانی ختم ہوتے ہی برھاپا اور موت قریب آجاتی ہے ۔ جسم کمزور پڑ جاتا ہے اور چمڑی ڈھیلی ہوجاتی ہے ۔

جاپےَآپِپ٘ربھوُتِہُلوءِ॥
جُگِجُگِداتااۄرُنکوءِ॥
جِءُبھاۄےَتِءُراکھہِراکھُ॥
جسُجاچءُدیۄےَپتِساکھُ॥
جاگتُجاگِرہاتُدھُبھاۄا॥
جاتوُمیلہِتاتُجھےَسماۄا॥
جےَجےَکارُجپءُجگدیِس॥
گُرمتِمِلیِئےَبیِساِکیِس॥੨੫॥
لفظی معنی:
جاپے ۔ ظاہر ہے ۔ تیہہ لوئے ۔ تینوں عالموں میں۔ جگ جگ ۔ ہر زمانے میں۔ زمانے کے ہر دور میں۔ داتا ۔ سخی ۔ دینے والا۔ اور ۔ دوسرا۔ جیو بھاوے ۔ جیسے چاہے ۔ تیو ۔ اُسی طرح ۔ جس ۔ صفت صلاح۔ جاچجیو ۔ مانگتا ہوں ۔ پت ساکھ ۔عزت و آبرو و یقین و ایمان۔ جاگ۔ بیداری ۔ ہوشیاری ۔ تدھ بھاوا۔ تجھے پیار لگوں ۔ تجھے سماوا۔ تجھ میں محو ومجذوب رہوں۔ جسے جیکار ۔ فتح ۔ جگدیس ۔ مالک علام ۔ گرمت۔ سبق مرشد۔ بیس ۔ اکیس ۔ یقینا ً ضرور۔
ترجمہ معہ تشریح:
تینوں عالموں میں الہٰی نور ظہور پذیر ہے اے خدا جیسی ہے تیری رضا اسی طرح رکھ ۔ میں تیری حمدوثناہ تجھس ے مانگتا ہوں اس سے مجھے آبرو و عزت و حشمت حاصل ہوتی ہے ۔ اگر تیری رضا و رغبت و حشمت حاصل ہوتی ہے ۔ تو بیدار رہوں ار تیرا وصل نصیب ہو تو دیدے تو میں تجھ میں محو ومجذوب رہوں ۔ میں ہمیشہ مالک عالم کی فتح بولتا ہوں۔ یقینا ً سبق مرشد سے الہٰی وصل و ملاپ نصیب ہوتا ہے ۔

جھکھِبولنھُکِیاجگسِءُۄادُ॥
جھوُرِمرےَدیکھےَپرمادُ॥
جنمِموُۓنہیِجیِۄنھآسا॥
آءِچلےبھۓآسنِراسا॥
جھُرِجھُرِجھکھِماٹیِرلِجاءِ॥
کالُنچاںپےَہرِگُنھگاءِ॥
پائیِنۄنِدھِہرِکےَناءِ॥
آپےدیۄےَسہجِسُبھاءِ॥੨੬॥
لفظی معنی:
جھکھ بولن ۔ غلط جھگڑے والی زبان سے بات نکالنا۔ واد ۔ جھگڑا۔ آس۔ اُمید ۔ جھور ۔ فکر ۔ تشویش۔ پرماد۔ تکبر۔ دیکھے پر ماد۔ تکبرانہ لہجہ یانظریہ ۔ نر اسا۔ نا اُمید ۔ ماٹی رل جائے ۔ نیست و نابود ہوجاتا ہے ۔ کال نہ چانچے ۔ موت اُسے اپنا لقمہ نہیں بناتی ۔ نوندھ ۔ نو خزانے ۔ ہر کے نائے ۔ الہٰی نام کے سہج ۔ قدرتاً۔
ترجمہ معہ تشریح:
دنیا سے جھگڑنا ذلالت و کواری ہے اس سے انسان اپنے پاگل پن سے غم و گشویش میں مرتا ہے ۔ تناسخ میں پڑا رہتا ہے روحانی واخلاقی زندگی کی نا اُمیدی ہوجاتی ہے غرض یہ کہ وہ غم ت تشویش و فکر مندی میں اس علام سے کوچ کرتا ہے ۔ جو الہٰی حمدوثناہ کرتا ہے ۔ وہ موت کا لقمہ نہیں بنتا خوف دور ہوجاتا ہے ۔ وہ رب کے نام سچ حق و حقیقت سے سارےع الم کے خزانوں اور دولت کا مالک ہوجاتا ہے یہ نعمت خدا اُسے اپنے رضا سے بخشش کرتا ہے ۔

جنِْیانوبولےَآپےبوُجھےَ॥
آپےسمجھےَآپےسوُجھےَ॥
گُرکاکہِیاانّکِسماۄےَ॥
نِرملسوُچےساچوبھاۄےَ॥
گُرُساگرُرتنیِنہیِتوٹ॥
لالپدارتھساچُاکھوٹ॥
گُرِکہِیاساکارکماۄہُ॥
گُرکیِکرنھیِکاہےدھاۄہُ॥
نانکگُرمتِساچِسماۄہُ॥੨੭॥
لفظی معنی:
چھیانو ۔ گیان ۔ آپے ۔ خود خدا۔ بوجھے ۔س مجھے ۔ انک ۔ سماوے ۔د لمیں بسائے ۔ نرمل۔ پاک ۔ سوچے ۔ پاک ۔ بھاوے ۔ پیارے ۔ ساگر۔ سمندر۔ رتنی ۔ قیمتی اشیا۔توٹ ۔ کمی ۔ پدارتھ ۔ نعمتیں ۔ ساچ ۔ اکھوٹ ۔ کم نہ ہونے والی حقیقت ۔ کرنی ۔ اعمال ۔ دھادہو ۔ بھٹکنے ہو ۔ گرمت ۔ سبق مرشد ۔س اچ سمادہو ۔ حقیقت اپناؤ۔
ترجہم
مرشد کے وسیلے سے خود خدا علم دیتاہ ے ۔ خود ہیس نتا ا ور سمجھتا ہے اور جو سبق مرشد دلمیں بساتے ہیں وہ پاک و پائس ہوجاتے ہیں تب پاک خدا اُنکو پایرا لگنے لتا ہے ۔ مرشد اوصاف کا سمندر ہے ۔ اس میں اوساف کی کمی نہیں ۔ سبق واعظ مرشد پرعمل کرؤ ۔ اے نانک سبق واعظ مرشد سے پاک خدا حقیقت و سچ میں محو ومجذوب ہوجاؤ گے ۔

ٹوُٹےَنیہُکِبولہِسہیِ॥
ٹوُٹےَباہدُہوُدِسگہیِ॥
ٹوُٹِپریِتِگئیِبُربولِ॥
دُرمتِپرہرِچھاڈیِڈھولِ॥
ٹوُٹےَگنّٹھِپڑےَۄیِچارِ॥
گُرسبدیِگھرِکارجُسارِ॥
لاہاساچُنآۄےَتوٹا॥
ت٘رِبھۄنھٹھاکُرُپ٘ریِتمُموٹا॥੨੮॥
لفظی معنی:
ٹوٹے نیہو۔ محبت ختم ہوجاتی ہے ۔ بولیہہ سہی ۔ ساہمنے بولنے سے ۔ بارہ ۔ بازو۔ دہودس۔ دونوں طرف۔ گہی ۔ پکڑنے سے ۔ بر بول۔ بری بات بولنے سے ۔ درمت ۔ کھوئی عقل ۔ بد عقلی ۔ ہر ہر ۔ چھور کر ۔ ڈہول۔ خاوند۔ ٹوٹے گنٹھ ۔ مخمسہ حل ہوجاتا ہے ۔ آپسی الجھاؤ ۔ پڑے وچار۔ سوچنے سے ۔ گر سبدی۔ کلام مرشد ۔ سبق مرشد۔ سار ۔ سنبھال۔ بسا۔ لاہا۔ منافع۔ لاہا ساچ۔ حقیقی منافع۔ توٹا ۔ کمی ۔ پریتم ۔ موٹا۔ بلند ہستی پیار۔
ترجمہ معہ تشریح:
کسی کے رو برو بدکلامی سے پیار ختم ہوجاتا ہے ۔ دونوں طرف سے بازو پکڑنے سے بازو ٹوٹ جاتا ہے ۔ بد کلامی سے محبت ختم ہوجاتی ہے ۔ بد عقل عورت کو خاوند چھوڑدیتا ہے ۔ نیک خیالات اور اچھی سوچ سے مسائل البجھے ہوئے حل ہوجاتے ہیں۔ سبق مرشد دلیں بسا کر کام کر ۔ سچ حق و حقیقت سے کوئی کمی واقع نہیں ہوتی تینوں عالموں کا مالک ہے بلند حیثیت کدا۔

ٹھاکہُمنوُیاراکھہُٹھاءِ॥
ٹھہکِمُئیِاۄگُنھِپچھُتاءِ॥
ٹھاکُرُایکُسبائیِنارِ॥
بہُتےۄیسکرےکوُڑِیارِ॥
پرگھرِجاتیِٹھاکِرہائیِ॥
مہلِبُلائیِٹھاکنپائیِ॥
سبدِسۄاریِساچِپِیاریِ॥
سائیِسد਼ہاگنھِٹھاکُرِدھاریِ॥੨੯॥
لفظی معنی:
ٹھاکو ۔ روکو۔ ٹھائے ۔ ٹھکائے ۔ ٹھہک موئی ۔ ٹکرا کر ۔ جھگڑ کر مرتی ہے ۔ اوگن ۔ بد اوصاف کی وجہ سے ۔ ٹھاکر ۔ مالک ۔ سبائی ۔ سارے ۔ ویس ۔ بھیس ۔ کوڑیار ۔ جھوٹی ۔ ٹھاک رہائی ۔ روک رکھی ۔ محل بلائی ۔ حقیقت اپنانے سے ۔ ٹھاک ۔ روک ۔ رکاوٹ ۔ سبد سواری۔ سبق و کلام سے ۔ طرز زندگی درست کر لیتا ہے ۔ ساچ پیاری ۔ الہٰی محبوبہ ۔ سوہاگن ۔ خاوند والی ۔ ٹھاکر دھاری ۔ خدا پرست ۔ الہٰی پیاری ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں اپنے من کو روکو قابو کرؤ۔ لوگ بد اوصاف اور برائیوں میں پڑ کر روھانی واخلاقی موت مرتے ہیں اور بعد میں بچھتاتے ہیں۔ خداوند کریم و احد ہستی ہے ۔ اور سارے اُس کی رعبت ہیں۔ جھوٹا انسان بہت سے بھیس بناتا ہے جو برائیوں اور بد ااعمال سے اپنے آپ کو روکتا اور بچاتا ہے خڈا اُسے اپناتا ہے ۔ اس کے راستے یعنی زندگی کےر اہ کی رکاوٹیںد ور ہوجاتی ہے جو کلام سبق و واعظ کیمطابق اپنی زندگی درست کر لیتا ہے ۔ وہ خدا کو محبوب ہوجاتا ہے ۔ خدا پرست ہے وہی جسے خڈا نےا پنا بنالیا۔

ڈولتڈولتہےسکھیِپھاٹےچیِرسیِگار॥
ڈاہپنھِتنِسُکھُنہیِبِنُڈربِنھٹھیِڈار॥
ڈرپِمُئیِگھرِآپنھےَڈیِٹھیِکنّتِسُجانھِ॥
ڈرُراکھِیاگُرِآپنھےَنِربھءُنامُۄکھانھِ॥
ڈوُگرِۄاسُتِکھاگھنھیِجبدیکھانہیِدوُرِ॥
تِکھانِۄاریِسبدُمنّنِانّم٘رِتُپیِیابھرپوُرِ॥
دیہِدیہِآکھےَسبھُکوئیِجےَبھاۄےَتےَدےءِ॥
گُروُدُیارےَدیۄسیِتِکھانِۄارےَسوءِ॥੩੦॥
لفظی معنی:
ڈولت ڈولت ۔ ڈگمگاتے ۔ بغیر مستقل مزاج ۔ سکھی ۔ ساتھی ۔ چیر سیگار ۔ سجاوٹی کپڑے ۔ ڈاہپن ۔ حسد۔ بن ڈر۔ بغیر خوف۔ بنٹھی ڈار۔ گروہ مٹ گئے ۔ڈرپ موئی گھر اپنے ۔ جس نے اپنے دل میں الہٰی خوف محسوس کیا۔ ڈیٹھی ۔ دیکھی ۔ نظر عنایت ۔ سجان ۔ دانشمند ۔ کنت ۔ خاوند مراد خدا۔ نر بھو نام وکھان ۔ بیخوف خدا کا نام سچ حق و حقیقت کہنے سے ۔ ڈرراکھیا ۔ خوف مٹائیا۔ ڈوگر واس ۔ پہاڑی رہائش ۔ تکھا آگھنی ۔ بھاری پیاس ۔ تکھا نواری ۔ پیاس بجھائی ۔ سبد من۔ دل نے کلام ۔ انمرت پیا بھر پور ۔ آبحیات جی بھر پیا ۔ مراد ۔ روحانی واخلاقی زندگی مکم طور پر بنائی دیہہ دیہہ آکھے سب کوئی ۔ مانگتے تو ہیں سارے ۔ بے بھاوے ۔ جو اُسے پیار ہے ۔ تیہہ ۔ اُسے ۔ گرو دوآرے دیو سی ۔ مرشد کے وسیلے سے دیتا ہے ۔ تکھا نوارے سوئے ۔ وہی مٹاتا ہے ۔ تشنگی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ساتھی بھٹکتے ڈگمگاتے تمام سجاوٹیں اور کپڑے پھٹ گئے ہیں مراد تمام روحانی واخلاقی کو شش بیکار چلی گئیں خواہشات کی تشنگی اور دوڑ دہوپ میں حسد اور اور خواہشات کی تشنگی سے جسمانی و ذہنی سکون حاصل نہیں ہو سکتا ۔ بغیر خدا کے خوف کے بیشمار گروہوں کے گروہ مٹ گئے جس نے خدا کے خوف کی وجہ سے دنیاوی دولت کی تشنگی مٹا دی ۔ اُس پر خدا پانی نظر عنایت سے دیکھتا ہے ۔ جس نے اپنے مرشد کے ذریعے بیخوف خدا کا نام سچ حق و حقیقت کہیا۔ جب تک دل میں تکبر اور غرور ہے دل میں خواہشات کی پیاس رہتی ہے ۔ جب دیدار ہوا تو ساتھ پائیا تشنگی ختم ہوئی اور کلام سے آبحیات پوری طرح سیر ہوکر نوش کیا اسے مانگتا تو ہر ایک ہے مگر دیتا اُسے ہے جسے پیار کرتا ہے ۔ خدا جسے مرشد کے وسیلے سے دے گا وہی دولت کی تشنگی مٹاتا ہے ۔

SGGS p.934
ڈھنّڈھولتڈھوُڈھتہءُپھِریِڈھہِڈھہِپۄنِکرارِ॥
بھارےڈھہتےڈھہِپۓہئُلےنِکسےپارِ॥
امراجاچیِہرِمِلےتِنکےَہءُبلِجاءُ॥
تِنکیِدھوُڑِاگھُلیِئےَسنّگتِمیلِمِلاءُ॥
منُدیِیاگُرِآپنھےَپائِیانِرملناءُ॥
جِنِنامُدیِیاتِسُسیۄساتِسُبلِہارےَجاءُ॥
جواُسارےسوڈھاہسیِتِسُبِنُاۄرُنکوءِ॥
گُرپرسادیِتِسُسنّم٘ہ٘ہلاتاتنِدوُکھُنہوءِ॥੩੧॥
لفظی معنی:
تلاش کرتی ڈہونڈتی پھرتی رہی آخر کنارےپر ہی گڑپڑی ۔ ڈہونڈت ڈھنڈولت ۔ جستجو تلاش۔ کرار ۔ کنارا۔ بھارے ۔ بھاری گناہگار ۔ ہوئے ۔ بے گناہ ۔ نکسے ۔ نکل گئے ۔ پار ۔ کامیاب ۔ ہوئے ۔ امرا جاچی ۔ ایسا حکم جس کی سمجھ نہ آسکے ۔ ڈہور۔ پاؤن کی خاک ۔ آگلئے ۔ نجات پایئے ۔ نرمل ناوں۔ پاک نام ۔ سچ و حقیقت۔ اُسارے ۔ پیدا کرے ۔ تس سملا۔ سنبھالا۔ دلمیں بسانا۔
ترجمہ معہ تشریح:
تلاش کرنے پر معلوم ہوا کہ انسان خواہشات کے بوجھ سے زندگی کے سمندر کے پہلے کنارے پر ہی گر پڑتے ہیں جبکہ بلا خواہشات یا جن کی خواہشات کم تھیں زندگی کے سمندر کو عبور کر لیتے ہیں قربان ہوں ان پر جنہوں نے وصل حق پا لیا ان کے خاک پا سے نجات حاصل ہوتی ہے مجھے بھی ان کی صحبت قربت عنایت کیجیئے جس نے اپنا دل مرشد کی بھینٹ چڑھا دیا اُسے الہٰی نام سچ حق و حقیقت بخشش کیا ہے ۔ اُس کی خدمت کرونگا۔ اُس پر جان قربان کرونگا۔ جو علام پیدا کرتا ہے مٹاتا ہے ۔ اگر رحمت مرشد سے دل میں اپنے مرشد کا دیا ہوا سبق و وعظ پر عمل کیا اسے پاک نام نصیب ہوا جس نے یہ عالم پیدا کیا ہے اُسے مسمار کرنے والا بھی وہی ہے اُس کے علاوہ کوئی دوسری ہستی نہیں۔ جو رحمت مرشد سے یاد وریاض کرتا ہے اُسے کوئی جسمای عذاب نہیں آتا ۔