Urdu-Master-23

SGGS -p. 707-750
پئُڑیِ ॥
سُپنے سیتیِ چِتُ موُرکھِ لائِیا ॥
بِسرے راج رس بھوگ جاگت بھکھلائِیا ॥
آرجا گئیِ ۄِہاءِدھنّدھےَدھائِیا॥
پوُرن بھۓنکامموہِیامائِیا॥
کِیا ۄیچاراجنّتُ جا آپِ بھُلائِیا ॥੮॥
لفظی معنی :
سپنے ۔ خواب۔ سیتی ۔ ساتھ۔ چت۔ دل ۔ مورکھ ۔ بیوقوف ۔ راج راس۔ حکمرانی مزے ۔ جگت۔ علام ۔ دنیا۔ جاگت۔ بیداری کی حالت میں۔ بھکھلائیا۔ بڑبڑئیا۔ خواب میں بولنا۔ عارجا ۔ عمر۔ زندگی ۔ وہائے ۔ گذر گئی ۔ دھندے دھائیا ۔ کام میں مشغول۔ وپرن ۔ مکمل۔ بھیئے ۔ ہوئے ۔ موہئیا ۔ محبت۔ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بیوقوف انسا ن نے خواب سے ہی محبت بنا رکھی ہے ۔ حکومتی لطف و مزے میں بیداری کی حالت میں خدا کو بھلا کر بڑ بڑا رہا ہے ۔ ساری زندگی اور عمر کام میں مشغول گذر گئی ۔ دنیاوی دولت کی محبت میں کام مکمل نہیں ہوئے ۔ مگر اسمیں بچارے انسان کے کونسے بس کی بات ہے جب جب خود خدا نے اُسے بھول میں ڈال رکھا ہے ۔

سلوک ॥
بسنّتِ س٘ۄرگلوکہجِتتےپ٘رِتھۄیِنۄکھنّڈنھہ॥
بِسرنّت ہرِ گوپالہ نانک تے پ٘رانھیِاُدِیانبھرمنھہ॥੧॥
کئُتک کوڈ تماسِیا چِتِ ن آۄسُناءُ॥
نانک کوڑیِ نرک برابرے اُجڑُ سوئیِ تھاءُ ॥੨॥
لفظی معنی :
بسنت۔ بستا ہو۔ سورک۔ لوکیہہ۔ جنت جیسے ملک اور لوگوں میں۔ جتنے پرتھیوی ۔ ساری دیا پر فتح پالی ہو۔ نوکھنڈنیہہ۔ تو براعظم ۔ وسرنت ہر گوپالیہہ۔ خدا بھلا کر ۔ ادیان۔ اجاڑ۔ سنسان ۔ بھرمینہہ۔ بھٹکتا ہے (1) کونک ۔ ۔کھیل۔ کوڈ۔ کروڑوں۔ چت نہ آوس۔ دلمیں خیال نہ آئے ۔ ناؤ۔ الہٰی نام ۔ کوڑی نرک ۔ خوفناک دوزخ اجڑ۔ سنسان ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اگر انسان جنت یا بہشت جیسے ملک میں آباد ہو اور ساری دنیا فتح کر لی ہومگر اے نانک خدا کو بھلا کر سنسان جنگل میں بھٹکتا سمجھو (1) دنیا کے کروڑوں کھیل تماشے ہونے کے باوجود اگر دل میں نہیں یاد خدا اے نانک وہ جگہ سنسان اور بھیانک دوزخ کے برابر ہے ۔

پئُڑیِ ॥
مہا بھئِیان اُدِیان نگر کرِ مانِیا ॥
جھوُٹھ سمگ٘ریِپیکھِسچُکرِجانِیا॥
کام ک٘رودھِاہنّکارِپھِرہِدیۄانِیا॥
سِرِ لگا جم ڈنّڈُ تا پچھُتانِیا ॥
بِنُ پوُرے گُردیۄپھِرےَسیَتانِیا ॥੯॥
لفظی معنی :
بھیان۔ دراؤنا۔ خوفناک۔ ادیان ۔ اجاڑ ۔ سنسان۔ نگر ۔ شہر۔ سمگری ۔ سامان۔ کام ۔ شہوت۔ کرؤدھ ۔ گصہ ۔ اہنکار۔ غرور۔ تکبر ۔ گھمنڈ۔ دیوانیا۔ پاگل۔ جم ڈنڈ۔ موت کا ڈندا۔ پورے گرویو۔ کامل مرشد۔ سیتانیا۔ خدا سے منکر۔ ابلیس ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بھاری سنسان جنگل کو شہر سمجھ لیا اور جھوٹے سامان کو دیکھ کر سچ اور حقیقت سمجھ لیا اور انسان شہوت غسہ اور تکبر میں پاگل ہو رہا ہے جب سر پر موت کا ڈنڈا پڑتا ہے تو پچھ تاپ کرتا ہے ۔ بغیر کامل مرشد کے پاگل ہوا پھرتا ہے ۔

سلوک ॥
راج کپٹنّ روُپ کپٹنّ دھن کپٹنّ کُل گربتہ ॥
سنّچنّتِ بِکھِیا چھلنّ چھِد٘رنّنانکبِنُہرِسنّگِنچالتے॥੧॥
پیکھنّدڑو کیِ بھُلُ تُنّما دِسمُ سوہنھا ॥
اڈھُ ن لہنّدڑو مُلُ نانک ساتھِ ن جُلئیِ مائِیا ॥੨॥
لفظی معنی :
راج ۔ حکومت۔ حکمرانی ۔ کپٹ ۔ کپٹنگ ۔ دہوکا فریب ۔ جھگڑا۔ روپ ۔ خوبصورتی ۔ دولت۔ سرامیہ۔ کل ۔خاندان۔ گربھیہہ۔ غرور۔ گھمنڈ ۔ سنچت ۔ الٹھا کرنا۔ وکھیا۔ زہریلی دولت۔ چھل چھلنگ۔ دہوکا۔ چھدر۔ چھدرنگ ۔ عیب ۔ برائی ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ چالتے ۔ جاتے (1) پیکھنڈڑو۔ دیکھنے کے لئے ۔ دستم سونیا ۔ دیکھنے میں خوبصورت ۔ اڈھ ۔ آدھی کوڈی ۔ لہندڑو۔ لیتا مل ۔ مقیمت۔ جلئی ۔ جاتی ۔
ترجمہ معہ تشریحح:
اے نانک۔ حکمرانی خوبصورتی سرمایہ خاندنانی غرور سب فریب اور دہوکا ہے دہوکے فریب سے دولت اکھٹی کرنی سراسر دہوکا ہے خدا کے بغیر کوئی شے انسان کے ساتھ نہیں جاتی (1) تما دیکھنے میں کتنا خوبصورت دکھائی دیتا ہے ۔ کیا یہ بھول نہیں مگر اسے آدھی کوڈی میں مول نہیں لیتا ۔ اے نانک سرامیہ انسان کے ساتھ نہیں جاتا۔

پئُڑیِ ॥
چلدِیا نالِ ن چلےَ سو کِءُ سنّجیِئےَ ॥
تِس کا کہُ کِیا جتنُ جِس تے ۄنّجیِئےَ॥
ہرِ بِسرِئےَ کِءُ ت٘رِپتاۄےَنامنُرنّجیِئےَ॥
پ٘ربھوُچھوڈِانلاگےَ نرکِ سمنّجیِئےَ ॥
ہوہُ ک٘رِپالدئِیالنانکبھءُبھنّجیِئےَ॥੧੦॥
لفظی معنی :
سنجیئے ۔ جمع کریں۔ جتن۔ کوشش۔ دنجیئے ۔ جدا ہوجانا ہے ۔ ترپتارے ۔ تسلی ہو ۔ تسکین ملے ۔ نجیئے ۔ رنجیدہ ۔ غمی ۔ ان ۔ دوسرے ۔ نرک۔ دوزخ۔ سمجیئے ۔ سمائیں۔ بسیں۔ بھؤ بھنجیئے ۔ خوف مٹاییئے ۔
ترجمہ:
جو بوقت آخرت ساتھ نہیں جاتی اسے کیوں اکھٹا کیا جائے ۔ اسکے لئے کیوں کوشش کیجائے جسے چھوڑ جانا ہے ۔ خدا کو بھلا کر تسکین نہیں ملتی نہ ہی دل کو خوشی حاصل ہوتی ہے ۔ دوزخ میں بستا ہے ۔ اے خدا کرم وعنایت فرمانانک کا خوف مٹا ۔

سلوک ॥
نچ راج سُکھ مِسٹنّ نچ بھوگ رس مِسٹنّ نچ مِسٹنّ سُکھ مائِیا ॥
مِسٹنّ سادھسنّگِ ہرِ نانک داس مِسٹنّ پ٘ربھدرسننّ॥੧॥
لگڑا سو نیہُ منّن مجھاہوُ رتِیا ॥
ۄِدھڑوسچتھوکِنانکمِٹھڑاسودھنھیِ॥੨॥
لفظی معنی :
نچ۔ نہ چیہہ۔ ناہی ۔ راج ۔ حکمرانی ۔ سکھ ۔ آرام۔ مسٹ میٹھے ۔ اچھے ۔ بھوگ رس۔ لذیز کھانے ۔ سکھ مائیا۔ دؤلت یا سرمائے کا سکھ ۔ مسٹ سادھ سگ ہر ۔ پاک دامنوں کی صحبت میں خدا۔ مسٹ ہر پربھ درسن ۔ میٹھا ہے ۔ الہٰی دیدار ۔ نیہو ۔ پریم پیار۔ مجھا ہو ۔ میں ۔ رتیا۔ محوومجذوب۔ ودھٹرو۔ باندھ دیا۔ سچ تھوک ۔ مکمل حق سچ حقیقت مراد خدا۔ مٹھڑا دودھنی ۔ میٹھا ہے وہ مالک
ترجمہ معہ تشریح:
نہ ہی حکومت کا مزہ نہ مصارفات کے لطف نہ دنیاوی دولت کی لذتیں حقیقی طور پر لطف ہیں اے نانک سچے ساتھیوں کی صحبت و قربت میں الہٰی نام ہی پر لطف ہے اور دیدار الہٰی ہی پر لطف ہے (1) اے نانک اگر انسان کو اسیی محبت ہو جاتے جس سے اسکا من سچے نام روپ نعمت میں محوومجذب ہوجائے تو اسے خدا کی محبت پیاری لگتی ہے ۔

. پئُڑیِ ॥
ہرِ بِنُ کچھوُ ن لاگئیِ بھگتن کءُ میِٹھا ॥
آن سُیاد سبھِ پھیِکِیا کرِ نِرنءُ ڈیِٹھا ॥
اگِیانُ بھرمُ دُکھُ کٹِیا گُر بھۓبسیِٹھا॥
چرن کمل منُ بیدھِیا جِءُ رنّگُ مجیِٹھا ॥
جیِءُ پ٘رانھتنُمنُپ٘ربھوُبِنسےسبھِجھوُٹھا॥੧੧॥
لفظی معنی :
کچھ ۔ کچھ بھی ۔ آن ۔ دیگر۔ دوسرے ۔ اور ۔ پھیکیا ۔ بدمزہ ۔ بے سودا۔ نرنو۔ نتیجہ نکال کر اصلیت سمجھ کر ۔ اگیان ۔ لاعلمی ۔ بھرم۔ وہم وگمان۔ ذہنی بھٹکن ۔ دکھ ۔ تکلیف ۔ عذآب ۔ گر بھیئے بسٹھا۔ مرشد وچوے یا وکیل ہوئے ۔ چرن کمل۔ پائے پاک۔ رنگ م محیٹھا ۔ مجیٹھ والا پکا رنگ۔ جیؤ۔ روح۔ پران۔ زندگی۔ تن جسم۔ من ۔ ذہن۔ ونسے ۔ مٹ گئے ۔ جھوٹا۔ جھوٹ۔
ترجمہ معہ تشریح:
عاشقان الہٰی کو الہٰی نام سچ اور حقیقت کے بغیر کسی سے نہیں ہوتی محبت اس بات کا خلاصہ اور حقیقت سمجھ کر پتا لگالیا کہ دوسری تمام لذتیں بد مزہ ہین مرشد ہمارے وکیل اور چولے یادرمیانی ہوئے جس سے لا علمی وہم وگمان اور ذہنی بھٹکن ختم ہوئی مجھے پائے الہٰی کا پیار ہوگیا اور اپنا گرویدہ ہوگیا جتنا مجیٹھی رنگ جو اتنا پکار ہوتا جو ایک دفعہ چڑھا اترتا نہیں اتنا گرویدہ ہوگیا ہوں ۔ اب خدا ہی ان کی روح جسم اور زندگی ہے اور دوسری مٹ جانے والی محبت مٹ جاتی ہے ۔

سلوک ॥
تِئکت جلنّ نہ جیِۄمیِننّنہتِیاگِچات٘رِکمیگھمنّڈلہ ॥
بانھ بیدھنّچ کُرنّک نادنّ الِ بنّدھن کُسم باسنہ ॥
چرن کمل رچنّتِ سنّتہ نانک آن ن رُچتے ॥੧॥
مُکھُ ڈیکھائوُ پلک چھڈِ آن ن ڈیئوُ چِتُ ॥
جیِۄنھسنّگمُتِسُدھنھیِہرِنانکسنّتاںمِتُ॥੨॥
لفظی معنی :
تنکت ۔ ترک کرکے ۔ جل۔ پانی ۔ جیو۔ زندگی۔ مین ۔ مچھلی ۔ تیاگ۔ ترک یا چھوڑ کر ۔ میگھ منڈلیہہ۔ برساتی بادل۔ بان۔ تیر۔ بدینچ ۔ بندھا جاتا ہے ۔ کرنک۔ ہرن ۔ ناد۔ آواز میں۔ ال بندھن۔ بھور بندھ جاتا ہے ۔ کسم باسنیہہ۔ پھولوں کی خوشبوں میں ( سنت) خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبر عاشقان الہٰی رچنت محو ومجذوب ۔ آن نہ رچتے ۔ دوسری خواہش نہیں (1) مکھ ڈکھاؤ۔ دیدار کرؤں ۔ پلک ۔ آنکھ جھپکنے کی دیر کے لئے ۔ آن۔ اور دیگر۔ ڈیوچت۔ تو دوسروں سے دل نہ لگاوں ۔ جیون سنگم۔ زندگی کا ساتھی ۔ تس دھنی ۔ اس مالک ۔ خدا۔ سنتاں مت۔ جو سنتوں کا دوست ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے پانی ترک کرکے مچھلی زندہ نہیں رہ سکتی نہ ہی پپیہا آسانی پانی کے قطرہ کے بغیر ہرن آواز یا راگ کے تیر میں بندھ جاتا ہے اور آواز کی طرف وڈڑتا ہے ۔ جسے گھنڈ بیڑا کہتے ہین ۔ جیسے بھلور پھولوں کی خوشبوں پر عاشق ہے خوشبو پر محو ومجذوب ہوکر خود اس میں بندھ جاتا ہے ۔ ایسے ہی خدا رسیدہ پاک دامن روحانی رہبروں عاشقان الہٰی خدا کے گرویدہ ہوکر اس میں محو و مجذوب ہو جاتے ہیں اے نانک۔ اس کے علاوہ ان کی کوئی خواہش نہیں رہتی ۔

پئُڑیِ ॥
جِءُ مچھُلیِ بِنُ پانھیِئےَ کِءُ جیِۄنھُپاۄےَ ॥
بوُنّد ۄِہوُنھاچات٘رِکوکِءُکرِت٘رِپتاۄےَ॥
ناد کُرنّکہِ بیدھِیا سنمُکھ اُٹھِ دھاۄےَ॥
بھۄرُلوبھیِکُسمباسُکامِلِآپُبنّدھاۄےَ॥
تِءُ سنّت جنا ہرِ پ٘ریِتِہےَدیکھِ درسُ اگھاۄےَ॥੧੨॥
لفظی معنی :
جیون ۔ زندگی ۔ بوند وہونا۔ بوند کے بغیر۔ ترپتاوے ۔ تسلی ۔ تسکین ۔ کرنکہہ ۔ ہرن۔ بیدھیا۔ بندھیا ہوا۔ سنمکہہ۔ ساہمنے ۔ اُٹدھارے ۔ ددوڑتا ہے ۔ بھور۔ بھور۔ لوبھی ۔ لالچی ۔ کسم باس۔ پھولوں کی خوشبو۔ بندھاوے ۔ بندھاتا ہے ۔ تیؤ۔ ایسے ہی ۔ دیکھ درس۔ دیدار کرکے ۔ اگھاوے ۔ تسلی ہوتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے مچھلی پانی کے بغیر زندہ نہیں رہ سکتی ۔ جیسے پپیہا بارش کے آسمانی قطرے کے بغیر اسے تسکین حاصل نہیں ہوتی ۔ جیسے ہرن کو گھنڈ ے ہیڑے کی آواز میں بندھا ہوا سیدھاا اُٹھ کر اسکی طرف دوڑ کرا آتا ہےا ور بھورا پھولوں کی خوشبوں میں پھول میں بندھا لیتا ہے ۔ ایسے ہی روحآنی رہبر (سنت ) کو خدا سے محبت ہوتی ہے الہٰی دیدار سے ان کو تسکین حاصل ہوتی ہے ۔

سلوک ॥
چِتۄنّتِچرنکملنّساسِساسِارادھنہ॥
نہ بِسرنّتِ نام اچُت نانک آس پوُرن پرمیسُرہ ॥੧॥
سیِتڑا منّن منّجھاہِ پلک ن تھیِۄےَباہرا॥
نانک آسڑیِ نِباہِ سدا پیکھنّدو سچُ دھنھیِ ॥੨॥
لفظی معنی :
چتونت ۔ دل میں خیال کرتے ہیں۔ چرن کمل۔ پاک پاؤں کا ۔ ساس ساس۔ ہر سانس۔ ارادھنیہہ۔ توجو دیتے ہیں۔ نیہہ۔ بسرنت نام۔ الہٰی نام سچ وحقیقت نہیں بھولتے ۔ اچت۔ لافناہ ۔ آس پور نیہہ۔ اُمیدیں پوری کرنے والا (1) سیتڑآ من۔ من بندھا ہوا۔ باہر۔ جدا ۔ پلک نہ تھیوے ۔ تھوڑ اساوقت بھی ۔ آسٹری نبھاہ سدا۔ ہمیشہ اُمیدیں پوری کرتا ہے ۔ پیکھندو سچ دھنی ۔ سچا مالک ۔ نگرانی اور سنبھال کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو خدا میں دھیان لگاتے ہیںا ور ہر سانس یاد میں رہتے ہیں۔ لافناہ نام بھلاتے ہیں خدا ان کی مرادیں خواہش پوریاں کرتا ہے (1) جو خدا میں محو ومجذوب رہتے ہیں تھوڑے سے وقفے کے لئے بھی جدا نہیں ہوتے ۔ اے نانک۔ خدا ان کی نگہبانی کرتا ہے اور سچا مالک امیدیں پوری کرتا ہے ۔

پئُڑیِ ॥
آساۄنّتیِآسگُسائیِپوُریِئےَ॥
مِلِ گوپال گوبِنّد ن کبہوُ جھوُریِئےَ ॥
دیہُ درسُ منِ چاءُ لہِ جاہِ ۄِسوُریِئےَ॥
ہوءِ پۄِت٘رسریِرُچرنادھوُریِئےَ॥
پارب٘رہمگُردیۄسداہجوُریِئےَ ॥੧੩॥
لفظی معنی :
آساونتی ۔ جس نے امید باندھی ہے ۔ آس۔ امید ۔ گوسائیں۔ پروردگار۔ مالک عالم۔ جہوریئے ۔ پسچا تاپ۔ درس۔ دیدار۔ وسوریئے ۔ فکر مندی ۔ پوتر۔ پاک ۔ مقدس۔ دہورئے ۔ دہول خاک۔ پار برہم۔ کامیابی عنایت کرنے والا۔ خضوریئے ۔ حاضر ناظر۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے مالک عالم اُمید رکھنے والے کی اُمید پوری کیجیئے الہٰی ملاپ ہونے پر کبھی فکر نہیں کرنا پڑتا اے خدا دیدار بدیہہ تاکہ فکر مندی نہ رہے اور تیرے پاؤں کی خاک سے جسم پاک و مقدس و متبر ہو جائے ۔ اے کامیابی عنایت کرنے والے خدا میں ہمیشہ تیری حضوری میں رہوں ۔

سلوک ॥
رسنا اُچرنّتِ نامنّ س٘رۄنھنّسُننّتِسبدانّم٘رِتہ॥
نانک تِن سد بلِہارنّ جِنا دھِیانُ پارب٘رہمنھہ॥੧॥
ہبھِ کوُڑاۄےکنّماِکسُسائیِباہرے॥
نانک سیئیِ دھنّنُ جِنا پِرہڑیِ سچ سِءُ ॥੨॥
لفظی معنی :
رسنا۔ زبان۔ اچرنت ۔ کہتے ہیں۔ نام ۔ نامنگ ۔ الہٰی نام۔ سچ و حقیقت ۔ سرون ۔ کانوں ۔ سننت ۔ سنتے ہیں۔ سبد انمرتیہہ۔ آب حیات کلام۔ بلہار ۔ قربان۔ دھیان ۔ توجہ ۔ پار برہمنیہہ۔ پارلگانے والے کا (1) ہب ۔ سارے ۔ کوڑا دے ۔ جھوٹے ۔ اکس ۔ واحد ۔ سائیں باہرے ۔ مالک کے علاوہ ۔ دھن۔ شاباش۔ پرہٹری ۔ پیار ۔ سچ سیؤ۔ سچے خدا سچ وحقیقت سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو زبان سے نام خدا کا لیتے ہیں اور کانوں سے الہٰی حمدوچناہ سنتے ہیںا ور خدا میں اپنا دھیان لگاتے ہیں آب حیات جیسے کلام میں ۔ نانک ہے سو بار قربان دھیان خدا یں لگاتے ہیں (1) خدا کے علاوہ دوسری کار سب جھوٹی ہے نانک شاباش ہے ان کو جن کا پیار سچے خدا سے ہے ۔

پئُڑیِ ॥
سد بلِہاریِ تِنا جِ سُنتے ہرِ کتھا ॥
پوُرے تے پردھان نِۄاۄہِپ٘ربھمتھا॥
ہرِ جسُ لِکھہِ بیئنّت سوہہِ سے ہتھا ॥
چرن پُنیِت پۄِت٘رچالہِپ٘ربھپتھا॥
سنّتاں سنّگِ اُدھارُ سگلا دُکھُ لتھا ॥੧੪॥
لفظی معنی :
ہرکتھا ۔ الہٰی کہانی ۔ پردھان۔ مننتخبہ ۔ سہتی ۔ توادیہہ پربھ متھا۔ جو خدا کے آگے پیشانی جھکاتے ہیں سجدہ کرتے ہیں۔ ہر جس ۔ الہٰی حمدوچناہ ۔ سوہے سہاونے ۔ سوہتھا ۔ وہ ہاتھ۔ پنیت لوتر۔ پاک و مقدس۔ پربھ پتھا ۔ الہٰی رہا پر ۔ ادھار۔ بچاؤ۔ سگلا ۔ سارا ۔ دکھ لتھا ۔ عذاب مٹا۔
ترجمہ معہ تشریح:
قربان ہوں ان پر جو ہمیشہ الہٰی کہانیاں سنتے ہیں جو خدا کے سجدہ کرتے ہیں جھکتے ہیں وہ کامل منتخبہ انسان ہیں جو الہٰی حمدوثناہ تحریر کرتے ہیں وہ ہاتھ پاک و مقدس ہیں وہ پاؤں پاک اور مقدس و مبارکباد کے مستحق ہیں جو الہٰی راہوں پر گذرتے ہیں خدا رسیدہ پاکدامن روحانی

سلوکُ ॥
بھاۄیِاُدوتکرنھنّہرِرمنھنّسنّجوگپوُرنہ॥
گوپال درس بھیٹنّ سپھل نانک سو مہوُرتہ ॥੧॥
کیِم ن سکا پاءِ سُکھ مِتیِ ہوُ باہرے ॥
نانک سا ۄیلڑیِپرۄانھُجِتُمِلنّدڑوماپِریِ ॥੨॥
لفظی معنی :
بھاوی ۔ رضائے الہٰی ۔ جیسا لازمی ۔ ہونا ہے ۔ ادوت ۔ ظاہر ہونا ہے ۔ ہر من۔ خدا میں محو ومجذوب سنجوگ پورنیہہ۔ پورے خؤش قسمتی ۔ درس بھیٹ ۔ ملاپ و دیدار ۔سپھل۔ کامیاب ۔ مہور تینہہ۔ وہ وقت (1) کیم ۔ قیمت۔ قدر۔ میتی ۔ اندازہ ۔ منتی ۔ شمار ۔ گنتی ۔ سا دبلڑی ۔ وقت ۔ موقہ ۔ پروان ۔ منظور۔ قبول ۔ ملندڑو ماہری ۔ میرے پیارے سے ملاپ ہو
ترجمہ معہ تشریح:
اے نانک وہ وقت مبار ک ہے جب الہٰی رضا و رغبت پر ظہور ار اور ظہور میں آتی ہے جب مکمل خوش قسمتی سے خدا میں اسکی محبت میں محو ومجذوب ہوتا ہے ۔ وہی وقت قبول و منظور ہوتا ہے جب پیارے کا وصل و ددیار ہوتا ہے اس سے آز حد آرام و آسائش ملتے ہیں جس کی قدروقیمت کا اندازہ نہیں وہ سکتا ۔

پئُڑیِ ॥
سا ۄیلاکہُکئُنھُہےَجِتُپ٘ربھکءُپائیِ॥
سو موُرتُ بھلا سنّجوگُ ہےَ جِتُ مِلےَ گُسائیِ ॥
آٹھ پہر ہرِ دھِیاءِ کےَ من اِچھ پُجائیِ ॥
ۄڈےَبھاگِستسنّگُہوءِنِۄِلاگاپائیِ॥
منِ درسن کیِ پِیاس ہےَ نانک بلِ جائیِ ॥੧੫॥
لفظی معنی :
مورت۔ مہورت۔ وقت ۔ موقعہ ۔ بھلا سنجوگ ۔ نیک بخت۔ خوش قسمتی ۔ کا وقت۔ گر سائیں۔ مالک کل ارآضی ۔ مالک عالم ۔ من اچھ ۔ دلی خواہش۔ ست سنگ ۔ سچا ساتھ ۔ ایسی صحبت جو سچ وحقیقت پر منحصر ہو۔ تو لاگا پائی ۔ جھک کر سجدہ کرؤں۔ درسن۔ ویدار ۔ پیاس ۔ چاہ۔ تشنگی ۔ خواہش۔ بل ۔ قربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
وہ کونساوقت ہے جب الہٰی ملاپ ہو وہ موقعہ وہ وقت نیک بخت ہے جب ملاپ ہو خدا کا ۔ تاکہ ہر وقت ۔ اسکی یادوریاض دل کی تمنا پوری ہو۔ بلند قسمت۔ سے سچی صحبت قربت حاصل ہوجائے تو انہیں جھک جھک کر سجدہ کروں میرے دل میں ددیار الہٰی کی تشنگی ہے ۔ اے نانک۔ قربان ہوں ۔

سلوک ॥
پتِت پُنیِت گوبِنّدہ سرب دوکھ نِۄارنھہ॥
سرنھِ سوُر بھگۄانہجپنّتِنانکہرِہرِہرے॥੧॥
چھڈِئو ہبھُ آپُ لگڑو چرنھا پاسِ ॥
نٹھڑو دُکھ تاپُ نانک پ٘ربھُپیکھنّدِیا॥੨॥
لفظی معنی :
خدا سارے ۔ عذاب مٹاتا ہے ۔ بداخلاق ۔ بد چلن ۔ ناپاک ۔ کو پاک اور نیک بناتا ہے ۔ پتت۔ ناپاک۔ اخلاق سے گرے ۔ ہوئے ۔ پنیت ۔ پاک وپائس ۔ دوکھ ۔ گناہ ۔ نوانیہہ ۔ مٹاتا ہے ۔ سرن پناہ۔ سور۔ سورما۔ بہادر۔ بگوانیہہ۔ بھاگاں والا۔ جپنت۔ جو اسے یاد کرتے ہیں (1) ہب۔ سب۔ آپ ۔ خودی ۔ نٹھڑو۔ دور ہوئے ۔ مٹے ۔ پیکھندیا۔ دیدار سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا بد چلن بدکار ناپاک کو نیک چلن اور پاک بنانے والا ہے ۔ ا نانک۔ جو اسکی یادوریاض کرتے ہیں خدا اپنا ہگیروں کو بچانے کی توفیق رکھتا ہے (1) جو خودی چھوڑ کر خدا سے اپنا رشتہ قائم کر لیت اہے ۔ اے نانک دیدار الہٰی سے اسکے ہر قسم کے جھگڑے اور عذاب مٹ جاتے ہیں۔

پئُڑیِ ॥
میلِ لیَہُ دئِیال ڈھہِ پۓدُیارِیا॥
رکھِ لیۄہُدیِندئِیالبھ٘رمتبہُہارِیا॥
بھگتِ ۄچھلُتیرابِردُہرِپتِتاُدھارِیا॥
تُجھ بِنُ ناہیِ کوءِ بِنءُ موہِ سارِیا ॥
کرُ گہِ لیہُ دئِیال ساگر سنّسارِیا ॥੧੬॥
لفظی معنی :
ڈیہہ پیئے ۔ گر پڑے در تیرے ۔ بھرمت بہو ہاریا۔ بھٹک بھٹک کر ماند پڑ گئے ۔ بھگت وچھل۔ پریمی کا پیارا۔ بروھ ۔ عاوت ۔ خاصہ ۔ پتت۔ بد اخلاق۔ بد چلن ۔ ادھاریا۔ بچانے والا۔ تجھ بن ناہی کوئے ۔ تیرے بغیر نہیں کوئی دوسرا۔ بنو موہے ۔ میری عرض گذارش ۔ ساریا۔ خبریگری ۔ پتہ کرنے والا۔ گر گیہہ۔ ہاتھ پکڑ کر۔ دیال ۔ مہربان۔ ساگر سنساریا۔ اس دنیاو سمندر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے رحمان الرحیم میں تیرے در پر مجبور ہوکر آئیا ہوں میں بھٹک بھٹک کر ماند پڑ گیا ہوں۔ پریم کا پیار تیرا دیرینہ قدیمی عادت ہے اراخلا ار راہ راست سے بھٹکے ہوؤں کو تو بچاتا اور راہ راست پر لاتا ہے اے خدا تیرے بغیر دوسری کوئی ہستی نہیں جو میری اس گذارش پر میری خبر گیری کرے ۔ میرا ہاتھ پکڑ کر مجھے اس دنیاو زندگی کے سمندر سے پار لگاییئے مراد کامیابی عنایت فرماییئے ۔

سلوک ॥
سنّت اُدھرنھ دئِیالنّ آسرنّ گوپال کیِرتنہ ॥
نِرملنّ سنّت سنّگینھ اوٹ نانک پرمیسُرہ ॥੧॥
چنّدن چنّدُ ن سرد رُتِ موُلِ ن مِٹئیِ گھاںم ॥
سیِتلُ تھیِۄےَنانکاجپنّدڑوہرِنامُ॥੨॥
لفظی معنی :
سنت اوھرن۔ سنت کو بچاؤ۔ دیال۔ مہربان۔ آسرا۔ آسرا۔ سہارا۔ گوپال۔ خدا۔ کرتنیہہ۔ حمدوثناہ۔ ۔ نرمل سنت سنگین ۔ روحانی رہبروں کی پاک صحبت و قربت ۔ اوٹ ۔ آسرا۔ پر مسوریہہ۔ خدا (1) چندن۔ چندن سے ۔ چندنہ چاند سے ۔ سر ورت۔ سروی کے موسم سے ۔ مول۔ بالکل۔ مٹی گھام۔ تپش نہیں بجھتی ۔ ستیل تھوے ۔ ٹھنڈک پڑتی ہے ۔ چندڑ و ۔ جپنے سے ۔ ۔ ہر نام۔ خدا ی عبادت سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبر سنت الہٰی حمدو ثناہ کو اپنی زندگی کا نسب العین بنا لیتے ہیں۔ ان کی پاک صحبت و قربت سے اے نانک الہٰی آسرا ملتا ہے (1) خواہ چندن ہو یا چاند یا سردی کا موسم بالکل ہی تپش دور نہیں ہو تی دل کی ۔ اے نانک۔ الہٰی نام کی یادوریاض سے ہی روحانی تپش دور ہوتی ہے ۔

پئُڑیِ ॥
چرن کمل کیِ اوٹ اُدھرے سگل جن ॥
سُنھِ پرتاپُ گوۄِنّدنِربھءُبھۓمن॥
توٹِ ن آۄےَموُلِسنّچِیانامُدھن॥
سنّت جنا سِءُ سنّگُ پائیِئےَ ۄڈےَپُن॥
آٹھ پہر ہرِ دھِیاءِ ہرِ جسُ نِت سُن ॥੧੭॥
لفظی معنی :
پرتاپ۔ عطمت۔ نر بھؤ۔ بیخوف ۔ لوٹ۔ کمی ۔ مول ۔ بالکل۔ سنچیا۔ جمع کیا۔ اکھٹا کر نے سے ۔ نام دھن۔ الہٰی نام ۔ سچ ۔ حق وحقیقت کی دؤلت سرمایہ ۔ سنت۔ روحانی رہبر۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ محبت وقربت ۔ دڈے پن۔ بھاری ثواب۔ نیک اعمال سے۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کے سہارے سارے عالم کا بچاؤ ہے (بدیوں سے ) الہٰی عظمت و حشمت سنکر بیخوفی ملتی ہے دل کو ( جوہیں عابد خدا ) جو الہٰی نام سچ حق و حقیقت کی دؤلت اکھٹی کرتے ہیں کمی واقع نہیں ہوتی ۔ ایسے خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبروں (سنتوں) کی صحبت و قربت بھاری ثواب اور نیک اعمال کرنے سے حاصل ہوتے ہین ہر وقت اس خدا کی یادوریاض کرنے سے اور الہٰی صفت صلاح سننے سے نصیب ہوتے ہیں۔

سلوک ॥
دئِیا کرنھنّ دُکھ ہرنھنّ اُچرنھنّ نام کیِرتنہ ॥
دئِیال پُرکھ بھگۄانہنانکلِپتنمائِیا॥੧॥
بھاہِ بلنّدڑیِ بُجھِ گئیِ رکھنّدڑو پ٘ربھُآپِ॥
جِنِ اُپائیِ میدنیِ نانک سو پ٘ربھُجاپِ॥੨॥
لفظی معنی :
دیا۔ مہربانی ۔ وکھ ہرن۔ عذآب مٹاتا ہے ۔ اچرن نام ۔ الہٰی نام کے بیان اور کیرتنیہہ۔ صفت صلاح کرنے سے ۔ ویال پرکھ بھگوانیہہ۔ خداوند کریم ۔ لپت ۔ ملوث ۔ مائیا ۔ دنیاوی دولت ۔ بھاہے بلندڑی ۔ جلتی آگ۔ رکھندڑو ۔ محافظ ۔ اپائی میدنی ۔ جس نے زمین پیدا کی ۔ سو ۔ اس ۔ پرتھ ۔ خدا۔ جاپ۔ جپ ۔ یاد کر۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو انسان الہٰی حمدوچناہ کرتا ہے اس پر خدا مہربان ہوکر اسکے عزآب و مصائب مٹاتاہے ۔ اے نانک۔ خداوند کریم اسے دنیاوی دولت میں ملوچ ہونے سے بچاتا ہے (1) اے نانک جس نے کل علام پیدا کیا اس کی عبادت وریاض سے انسان کے دل میں بدکاریوں سے محافظ بنتا ہے ۔ خود خدا اور خواہشات و تمناؤں کی جلتی آگ بجھاتا ہے ۔

پئُڑیِ ॥
جا پ٘ربھبھۓدئِیالنبِیاپےَمائِیا॥
کوٹِ اگھا گۓناسہرِاِکُدھِیائِیا॥
نِرمل بھۓسریِرجندھوُریِنائِیا॥
من تن بھۓسنّتوکھپوُرن پ٘ربھُ پائِیا ॥
ترے کُٹنّب سنّگِ لوگ کُل سبائِیا ॥੧੮॥
لفظی معنی :
دیال۔ مہربان۔ دیاپے ۔ احساس۔ تاثر۔ کوٹ۔ کروڑوں ۔ اگھا ۔ گناہ ۔ دوش۔ جرم۔ ناس۔ ختم ہوئے ۔ نرمل۔ پاک ۔ جن ۔ خادم۔ خدمتگار۔ دہوری ۔ دہول۔ خاک۔ سنتوکہہ۔ صبر۔ کٹنب۔ قبیلہ ۔ خاندان ۔ سنگ ۔ ساتھ۔ سبائیا۔ سارے
ترجمہ معہ تشریح:
جب ہو مہربان خدا تاثر دنیاوی دولت نہیں پا سکتی ۔ واحد خدا کی یادوریاض و عبادت سے کروڑوں گناہ عافو ہو جاتے ہیں۔ اور دہول عابداں سے جسم پاک ہوجاتے ہیں۔ الہٰی ملاپ سے دل وجان کو صبر و تسکین ملتی ہے ۔ غرض یہ کہ سارا خاندان اور قبیلہ کامیابی حاصل کرتا ہے ۔

سلوک ॥
گُر گوبِنّد گوپال گُر گُر پوُرن نارائِنھہ ॥
گُر دئِیال سمرتھ گُر گُر نانک پتِت اُدھارنھہ ॥੧॥
بھئُجلُ بِکھمُ اسگاہُ گُرِ بوہِتھےَ تارِئمُ ॥
نانک پوُر کرنّم ستِگُر چرنھیِ لگِیا ॥੨॥
لفظی معنی :
گر۔ مرشد۔ گوبند۔ مانند خدا۔ گوپال۔ پروردگار ۔ پورن ۔ کامل۔ گردیال۔ مہربان۔ سمرتھ۔ باتوفیق۔ پتت۔ گناہگاروں کو بچانے والا (1) بھوجل وکھم۔ اسگاہ ۔ خوفناک سمندر دشوار گذار ((جسکا ) جس کی گہرائی کا اندازہ نہ وہ سکے ۔ گر بوہتھ تاریم۔ مرشد اس کے لئے جہاز ہے اس کو پار یا عبور کرنے کے لئے ۔ پور کرم ۔ بلند قسمت۔ ستگر۔ سچے مرشد۔ چرنی لگیا۔ جو پاؤں پڑتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے نانک۔ مرشد مانند خدا پروردگار اور نارئان جیس اہے مہربان ہے یا توفیق و قوت اور بدقماش کو راہ راست پر لاکر کامیاب بنانے والا ہے (1) یہ عالم بھاری خوفناک سمندر کی مانند جس کی گہرائی کا اندازہ نہ کیا جا سکے کے لئے ایک جہاز کی مانند اس عبور کرنے کے لئے ۔ اے نانک ۔ بلند قسمت ہے وہ انسان جو اسکے زیر سایہ جاتا ہے ۔

پئُڑیِ ॥
دھنّنُ دھنّنُ گُردیۄجِسُسنّگِہرِجپے॥
گُر ک٘رِپالجببھۓتاۄگُنھسبھِچھپے॥
پارب٘رہمگُردیۄنیِچہُاُچتھپے॥
کاٹِ سِلک دُکھ مائِیا کرِ لیِنے اپ دسے ॥
گُنھ گاۓبیئنّترسناہرِجسے॥੧੯॥
لفظی معنی :
دھن۔ شاباش۔ گرویو۔ فرشتہ مرشد کو۔ جس سنگ۔ جس کے ساتھ۔ ہر جپے ۔ یاد خدا کی کی جائے ۔ کرپال۔ مہربان۔جب بھیئے ۔ جب ہوئے ۔ اوگن ۔ بداوصاف۔ چھپے ۔ دور ہوئے ۔ پار برہم ۔ پار لگا نے والا ۔ کامیاب بنانے والا۔ نیچ ۔ کمینہ ۔ نیچا۔ اوچ ۔ اونچا۔ بلند رتبہ ۔ تھپے ۔ بنا دیتا ہے ۔ کاٹ سلک ۔ پھندہ کاٹ کر ۔ بے انت ۔ بیشمار۔ رسنا۔ زبان سے ۔ ہر جسے ۔ الہٰی حمدوثناہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
قربان ہوں مرشد پر جس کی صحبت و قربت میں الہٰی عبادت وریاضت ہو سکتی ہے جب مہربان مرشد ہوجائے تو سارے عیب مٹ جاتے ہیں چھپ جاتے ہیں۔ مرشد دنیاوی دولت کا پھندہ کاٹ کر اپنے خدمتگار بنا لیتا ہے ۔ مرشد کا میابیاں عنایت کرنے والا کھگی اور کمینہ پن سے بلند رتبہ بنا دتیا ہے ۔ زبان سے الہٰی حمدوثناہ اور صفت صلاح کرجاتی ہے ۔

سلوک ॥
د٘رِسٹنّتایکوسُنیِئنّتایکوۄرتنّتایکونرہرہ॥
نام دانُ جاچنّتِ نانک دئِیال پُرکھ ک٘رِپاکرہ॥੧॥
ہِکُ سیۄیِہِکُسنّملاہرِاِکسُپہِ ارداسِ ॥
نام ۄکھرُدھنُسنّچِیانانکسچیِراسِ॥੨॥
لفظی معنی :
درسٹنت ۔ دکھائی دیتا ہے ۔ ایکو ۔ واحد۔ شنست۔ سنتے ہیں۔ درتنت ورتمان۔ موجود۔ نر ہرہے ۔ خالق۔ خلقت ۔ نام دان ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت کی خیرات۔ جاچنت ۔ مانگتا ہوں ۔ دیال پرکھ ۔ رحمان الرحیم ۔ کر پا کریہہ۔ رحمت فرمائے (1) ہک سیوی ۔ خدمت واحد۔ بک سنھلا۔ واحد کی ہی یادوریاض ۔ ارداس۔ عرض گذاروں ۔ نام وکھر۔ نام کا سودا۔ سلف ۔ دھن۔ دولت۔ سرمایہ۔ سنچیا۔ اکھٹا کیا۔ جمع کیا۔ سچی راس۔ سچی پونچی ۔ سچا سرمایہ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے نانک۔ جن پر ہوتی ہے رحمت خدا کی وہ سے عبادت و ریاضت کی خیرات مانگتے ہیں۔ انہیں ہر جگہ بستا معلوم ہوتا ہے خدا جو خالق ہے خلقت کا دیکھتے ہیں ساری مخلوقات میں اور سنتے ہیں۔واحد خدا سے سے ہے گذارش میری اس واحد کو دل میں بساؤ اپنے اور خدمت کرؤں (1) اے نانک۔ جنہوں نے الہٰی نام حق سچ وحقیقت دل میں بسائی ہے اور جمع کیا ہے ان کا یہ سرمایہ صدیوی قائم رہتا ہے

پئُڑیِ ॥
پ٘ربھدئِیالبیئنّتپوُرناِکُایہُ॥
سبھُ کِچھُ آپے آپِ دوُجا کہا کیہُ ॥
آپِ کرہُ پ٘ربھدانُآپےآپِلیہُ॥
آۄنھجانھاہُکمُ سبھُ نِہچلُ تُدھُ تھیہُ ॥
نانکُ منّگےَ دانُ کرِ کِرپا نامُ دیہُ ॥੨੦॥੧॥
جیَتسریِ بانھیِ بھگتا کیِ
لفظی معنی :
دیال ۔ مہربان۔ بے انت۔ بیشمار۔ پورن ۔ کامل۔ اک الہہ۔ یہ واحد خدا ۔ سب کچھ آپے آپ۔ ہر شے میں ہے ۔ خود خدا۔ کہا کیہہ۔ کسے کہوں۔ آون جانا حکم۔ پیدائش موت اسکے زیر فرمان ہے ۔ نہچل۔ مستقل ۔ تھیہہ۔ ٹھکانہ ۔ تدھ ۔ تیرا
ترجمہ معہ تشریح:
صرف خدا جو رحمان الرحیم اعداد و شمار سے بعید جو ہر طرح سے کامل ہے جو سب کچھ از خود ہے دوسرا کسے کہوں اور بتاوں جو اسکا ثانی ہو خدا خود ہی خیرات دیتا ہے اور خود ہی لیتا ہے ۔ موت و پیدائش اسکے زیر فرمان ہے مگر اے خدا تیر ٹھکانہ صڈیوی اور مستقل ہے ۔ نانک۔ تجھ سے خیرات یا بھیک مانگتا ہے ۔ از کرم عنایت الہٰی نام حق سچ وحقیقت عنایت کر۔


ستِگُر پ٘رسادِ॥
ناتھ کچھوُء ن جانءُ ॥
منُ مائِیا کےَ ہاتھِ بِکانءُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
تُم کہیِئت ہوَ جگت گُر سُیامیِ ॥
ہم کہیِئت کلِجُگ کے کامیِ ॥੧॥
اِن پنّچن میرو منُ جُ بِگارِئو ॥
پلُ پلُ ہرِ جیِ تے انّترُ پارِئو ॥੨॥
جت دیکھءُ تت دُکھ کیِ راسیِ ॥
اجوَں ن پت٘ز٘زاءِنِگمبھۓساکھیِ॥੩॥
گوتم نارِ اُماپتِ س٘ۄامیِ॥
سیِسُ دھرنِ سہس بھگ گاںمیِ ॥੪॥
اِن دوُتن کھلُ بدھُ کرِ مارِئو ॥
بڈو نِلاجُ اجہوُ نہیِ ہارِئو ॥੫॥
کہِ رۄِداسکہاکیَسےکیِجےَ॥
بِنُ رگھُناتھ سرنِ کا کیِ لیِجےَ ॥੬॥੧॥
لفظی معنی :
ناتھ ۔ مالک ۔ کچھو ۔ کچھ بھی ۔ بکانؤ۔ غلام ہوگیا (1) رہاؤ۔ کہت ہو ۔ کہاتے ہو۔ جگت۔ دنیا۔ گر سوآمی ۔ مرشد مالک۔ کامی ۔ شہوت والے (1) جت دیکھؤ۔ جدھر دیکھتا ہوں۔ دکھ کی راسی ۔ عذآب کا سامان۔ اجو ۔ اب بھی ۔ پتیائے ۔ بھروسا۔ نگم۔ وید۔ ساکھی ۔ گواہ ۔ گوتم نار۔ گوتم رشی کی بیوی رہلیا۔ اوماپت ۔ پاربتی کا خاوند شوجی ۔ سیس دھرن۔ جس کے ہاتھ پر برہما سر جڑ گیا تھا۔ اندر جس کے جسم پر ہزاروں عورت کے پوشیدہ اعضے بن گئے ( سہس بھگ) (4) دوتن۔ دشمنوں ۔ کھل بدھ ۔ بیوقوفانہ سمجھ ۔ جہالت ۔ نلاج ۔ بے عزت۔ بے شرم۔ بے حیا 5) کیسے کیجے کیسے کیا جائے ۔ بن رگھناتھ ۔ بغیر خدا کے ۔ سرن ۔ پناہ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا میرا دل دنیاوی دولت کا غلام ہوگیا ہے (1) رہاؤ۔ آپ جہان اور عالم کے مالک کہلاتے ہو اور ہم دنیا کے شہوت پرست (1) ان پانچ بد احساسات نے میرے دل میں کرابی پیدا کر رکھی ہے کہ ہر وقت میرا خدا کے درمیان خلاص پیدا ہو رہا ہے (2) جدھر نظر جاتی ہے ۔ عذآب کے سامان ہیں۔ اگر اب بھی وشواش نہیں آتا تو وید اسکے گواہ ہیں (3) گوتم رشی ولی اللہ کی بیوی اہلیا اور پاربتی کا خآوند شوجی ۔ ہزاروں عورت کے پوشیدہ اعضے والا نادر سب ان پانچوں بد احساس کی وجہ سے ذلیل و خوار ہوئے (4) ان دشمنوں نے بیوقوف اور جاہل بنا کر خوار کیا ۔ بھاری بے حیا ہیں ابھی بھی شکست نہیں کھائی (5) اے رودیداس ۔ بتادے کہ کہاں جاؤں کیا کرؤں ۔ بغیر خدا کے کس کی پناہ اور سہارا لوں۔
خلاصہ کلام:
برائیوں سے بچنے کا واحد ذریعہ الہٰی آسرا ہے ۔

ستِنامُ کرتا پُرکھُ نِربھءُ نِرۄیَرُاکالموُرتِاجوُنیِ سیَبھنّ گُرپ٘رسادِ॥
راگُ ٹوڈیِ مہلا ੪ گھرُ ੧॥
ہرِ بِنُ رہِ ن سکےَ منُ میرا ॥
میرے پ٘ریِتمپ٘رانہرِپ٘ربھُگُرُمیلےبہُرِنبھۄجلِپھیرا ॥੧॥ رہاءُ ॥
میرےَ ہیِئرےَ لوچ لگیِ پ٘ربھکیریِہرِنیَنہُہرِپ٘ربھُہیرا॥
ستِگُرِ دئِیال ہرِ نامُ د٘رِڑائِیاہرِپادھرُہرِپ٘ربھکیرا॥੧॥
ہرِ رنّگیِ ہرِ نامُ پ٘ربھپائِیاہرِگوۄِنّدہرِپ٘ربھکیرا ॥
ہرِ ہِردےَ منِ تنِ میِٹھا لاگا مُکھِ مستکِ بھاگُ چنّگیرا ॥੨॥
لوبھ ۄِکارجِنامنُلاگاہرِۄِسرِیاپُرکھُچنّگیرا॥
اوءِ منمُکھ موُڑ اگِیانیِ کہیِئہِ تِن مستکِ بھاگُ منّدیرا ॥੩॥
بِبیک بُدھِ ستِگُر تے پائیِ گُر گِیانُ گُروُ پ٘ربھکیرا॥
جن نانک نامُ گُروُ تے پائِیا دھُرِ مستکِ بھاگُ لِکھیرا ॥੪॥੧॥
لفظی معنی :
ہر پربھ ۔ خدا۔ گرمیلے ۔ مرشد ملائے ۔ بہور۔ دوبارہ ۔ بھوجل۔ خوفناک سمندر (1) رہاؤ۔ ہیرے ۔ دلمیں۔ لوچ ۔ تمنا۔ خواہش ۔ پربھ کیری ۔ خدا کی ۔نینہو۔ ہر پربھ ہیرا۔ آنکھوں سے خدا کا دیدار کروں ۔ درڑائیا۔ مکمل طور دلمیں بتھائیا۔ پادھر ۔۔ راستہ ۔ طریقہ ۔ سلیقہ ۔(1) ہر رنگی ۔ رنگین مزاج خدا۔ ہر نام ۔ الہٰی نام سچ حق وحقیقت ۔ من تن ۔ دل و جان ۔ میٹھا ۔ پیارا۔ مکھ ۔ منہ ۔ مستک ۔ پیشانی ۔ بھاگ۔ تقدیر ۔ مقدرر۔ قسمت (2) منمکہہ۔ مرید من ۔ خودی پسند۔ مودھ ۔ بیوقوف۔ ماہل ۔ اگیانی ۔ لا علم ۔ بھاگ مندریر۔ بد قسمت (3) پبیک بدھ ۔ نیک و بد کی تمیز کی سمجھ رکھنے والی عقل ۔ گر گیان ۔ علم مرشد ۔ گروپربھ کیرا۔ خدا کے بارے مرشد۔ دھر مستک بھاگ لکھیر۔ بارگاہ الہٰی سے تحریر شدہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا دل خدا کی یاد کے بغیر رہ نہیں سکتا۔ جسے مرشد زندگی سے پیارے خدا کو ملا دیتا ہے ۔ اسکا تناسخ مٹ جاتا ہے (1) رہاو۔ میرے دل میں یہ خواہش زور پار رہی ہے ۔ کہ اپنی آنکھوں سے الہٰی دیدار پاوں مہربان سچے مرشد نے الہٰی نام پختہ طور پر دل میں بیٹھادیا خدا سے ملاپ کا صحیح صراط مستقیم ہے (1) بیشمار رنگین مزاج خدا کا نام جس نے حاصل کر لی اس کے ذہن دل و دماغ میں پیار ا لگنے لگتا ہے اور اسکی پیشانی پر اسکی خوش قسمتی بیدار ہو جاتی ہے (2) جس نے نیک بخت خدا کو بھلائیا۔ انہوں نے لالچ برایؤں و بدیوں میں دل لگائیا۔ وہ بد قسمت لا علم جاہل خودی پسندوں کی پیشانی پر بد قسمتی اُبھرتی ہے (3) اے خدمتگار نانک۔ جن کی تقدیر یا مقدر میں بار گاہ الہٰی سے تحریر ہوتا ہے انہیں مرشد سے الہٰی نام سچ حق وحقیقت حاصل ہوتا ہے ۔ انہیں مرشد سے نیک وید کی تمیز کرنے کی عقل و شعور حاصل ہوتی ہے ۔ اور الہٰی ملاپ کا طریقہ و سلیقہ کی سمجھ آتی ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫ گھرُ ੧ دُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
سنّتن اۄرنکاہوُجانیِ॥
بیپرۄاہسدارنّگِہرِ کےَ جا کو پاکھُ سُیامیِ ॥ رہاءُ ॥
اوُچ سمانا ٹھاکُر تیرو اۄرنکاہوُتانیِ॥
ایَسو امرُ مِلِئو بھگتن کءُ راچِ رہے رنّگِ گِیانیِ ॥੧॥
روگ سوگ دُکھ جرا مرا ہرِ جنہِ نہیِ نِکٹانیِ ॥
نِربھءُ ہوءِ رہے لِۄایکےَنانکہرِمنُ مانیِ ॥੨॥੧॥
لفظی معنی :
اور دیگر۔ کاہو۔ کسی کو۔ جانی ۔ سمجھنے ۔ رنگ ہر کے ۔ الہٰی پریم پیار میں۔ پاکھ ۔ امداد ۔ رہاؤ۔ اوچ سمانا۔ بلند شامیانہ اور نہ کاہو۔ اور کسی کی ۔ تانی ۔ طاقت۔ امر۔ فرامن۔ راج رمے رنگ گیانی۔ روحانیت کو سمجھنے والے پریم پیار میں محو ومجذوب (1) روگ سوگ ۔ بیماری و افسوس ۔ دکھ ۔ عذآب ۔ جرا ۔ بڑھاپا۔ مرا۔ موت۔ ہر جنیہہ۔ الہٰی خدمتگاروں ۔ نکٹانی ۔ نزدیک نہیں پھٹکتی ۔ نربھو۔ بیخوف۔ لو ایکے ۔ واحدا کی محبت میں ۔ ہر من مانی ۔ دلمیں خدا کا یقین و شواش بن جاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
پاکدامن خدا رسیدہ روحانی رہبروں ( سنتہوں ) کو خدا کے بغیر کسی کی محتاجی نہیں رہتی ۔ جس کا مددگار ہو خود خدا وہ الہٰی پریم پیار میں محؤ ومجذوب لا پرواہ وہ رہتے ہیں۔ رہاو۔ بلند رتبہ ہے مالک تیرا انتی توفیق اور کس میں ہے ۔ خادمان خدا کو ایسا صدیوی خدا سے ملاپ ہوا ہے وہ روحآنیت کو جاننے والے الہٰی پریم پیار میں محو ومجذوب رہتے ہیں (1) بیماری مصیبت فکر و تشویش بڑھاپا و موت الہٰی خدمتگاروں کے نزدیک نہیں پھٹکتی ۔ اے نانک۔ وہ واحد خدا کیمحبت میں بیخوف الہٰی یاد میں بالیقین دوشواس انکے دل میں بسا رہتا ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ہرِ بِسرت سدا کھُیاریِ ॥
تا کءُ دھوکھا کہا بِیاپےَ جا کءُ اوٹ تُہاریِ ॥ رہاءُ ॥
بِنُ سِمرن جو جیِۄنُبلناسرپجیَسےارجاریِ॥
نۄکھنّڈنکوراجُ کماۄےَانّتِچلیَگو ہاریِ ॥੧॥
گُنھ نِدھان گُنھ تِن ہیِ گاۓجاکءُکِرپادھاریِ॥
سو سُکھیِیا دھنّنُ اُسُ جنما نانک تِسُ بلِہاریِ ॥੨॥੨॥
لفظی معنی :
خوآری ۔ ذلالت۔ اوطے ۔ آسرا۔ مدد۔ سمرن۔ یاد خدا۔ جیون ۔ زندگی۔ بلتا۔ حصد۔ سرپ ۔ سانپ۔ رجاری ۔ عارضا ۔ عمر ۔ نوکھنڈن ۔ زمین کے نو براعظم ۔ راج کماوے ۔ حکومت کرتا ہو۔ انت۔ آخر۔ چلیگوہاری ۔ آخر شکست ہوگی (1) گن ندھان۔ اوصاف کا خزانہ ۔ گن تن ہی گائے ۔ اسی نے حمدوثناہ کی ۔ جاکؤ ہر پادھاری ۔ جن پر رحمت فرمائی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں خدا کو زلیل ہونا پڑتا ہے ۔ اے خدا جس کو ہو امداد تمہارے دہوکا اسکے ساتھ کیسے ہو سکتا ہ ۔ رہاؤ۔ خدا کو بھال کر زندگی لمبی عمر کے سانپ مانند ہوتی ہے کیونکہ تنہی زیادہ زہریلا ہوتا ہے اور خطر ناک۔ اگر انسان زمین کے نو براعظموں پر حکرمانی ہو حوکمت کرتا ہو مگر اخر زندگی کی شکست خوردہ ہوتی ہے (1) اے نانک۔ اوصاف کے خزانے خدا کی حمدوثناہ صفت و صلاح اور ریاضت و عبادت دہی کرتا ہے جس پر الہٰی رحمت ہو ۔ وہ آرما دیہہ زندگی بسر کرتاہے ۔ اس کا جنم لینا ہی مبارکباد کا مستحق ہے ۔ قربان ہوں اس پر۔

ٹوڈیِ مہلا ੫ گھرُ ੨ چئُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
دھائِئو رے من دہ دِس دھائِئو ॥
مائِیا مگن سُیادِ لوبھِ موہِئو تِنِ پ٘ربھِآپِبھُلائِئو॥ رہاءُ ॥
ہرِ کتھا ہرِ جس سادھسنّگتِ سِءُ اِکُ مُہتُ ن اِہُ منُ لائِئو ॥
بِگسِئو پیکھِ رنّگُ کسُنّبھ کو پر گ٘رِہ جوہنِ جائِئو ॥੧॥
چرن کمل سِءُ بھاءُ ن کیِنو نہ ست پُرکھُ منائِئو ॥
دھاۄتکءُدھاۄہِبہُبھاتیِجِءُتیلیِبلدُبھ٘رمائِئو॥੨॥
نام دانُ اِسنانُ ن کیِئو اِک نِمکھ ن کیِرتِ گائِئو ॥
نانا جھوُٹھِ لاءِ منُ توکھِئو نہ بوُجھِئو اپنائِئو ॥੩॥
پرئُپکار ن کبہوُ کیِۓنہیِستِگُرُسیۄِدھِیائِئو॥
پنّچ دوُت رچِ سنّگتِ گوسٹِ متۄارومدمائِئو ॥੪॥
کرءُ بینتیِ سادھسنّگتِ ہرِ بھگتِ ۄچھلسُنھِآئِئو॥
نانک بھاگِ پرِئو ہرِ پاچھےَ راکھُ لاج اپُنائِئو ॥੫॥੧॥੩॥
لفظی معنی :
انسان کا دل ہر طرح دوڑ دہوپ کرتا ہے ۔ دنیاوی دؤلت میں محو لذتوں کا لالچ کی محبت میں خدا نے خود اسے گمراہ کیا ہے ۔ رہاؤ۔ دھابیؤ۔ دور دہوپ۔ دیہہ دس ۔ دسوں طرفوں میں مراد ہر طرف۔ مگن ۔ محو۔ مست۔ سوآد۔ لطف ۔ لذت۔ مزہ۔ لوبھ ۔ لالچ۔ موہیو۔ محبت کی کشش میں۔ تن ۔ انہیں۔ بھلائیو ۔ گمراہ ۔ رہاؤ۔ سادھ سگنت ۔ صحبت و قربت خدا رسیدہ گان ۔ مہت ۔ تھوڑے سے وقفے کے لئے ۔ من لابیو۔ دلچسپی نہیں لی ۔ وگسیؤ ۔ خوش ہوتا ہے ۔ پیکھ ۔ دیکھ کر۔ رنگ کسنبھ ۔ گل لالا کا رنگ ۔ پر گریہہ۔ دوسروں کے گھر۔ جوہن ۔ تاک (1 ) بھاؤ۔ پیار ۔ پریم۔ ست پرکھ ۔ سچا خدا۔ دھاوت۔ بھٹکنے والے ۔ ختم ہو جانے والے ۔ دھاویہہ۔ دوڑتا ہے ۔ بہو بھاتی ۔ بہت سے طریقوں سے ۔ جیؤ تیلی مل بھرمائیو۔ جس نے تیل کا بیل گھومتا ہے (2) نام سچ حق و حقیقت کا اپانان۔ دان ۔ خریات۔ اسنان ۔ زیارت۔ نمکھ ۔آنکھ جھپکنے کے وقفے کے لئے ۔ کیرت۔ صفت صلاح۔ نانا۔ کسی قسم کے جھوٹ۔ من توکھیؤ۔ خوش کیا۔ نیہہ بوجھیؤ۔ نہ سمجھیا ۔ اپنایؤ۔ اپنائیا۔ مراد حقیقت پر عمل کیا (3) پر اپکا ۔ دوسرو کی مدد۔ کبہو ۔ کبھی ۔ ستگر سیو۔ سچے مرشد کی خدمت۔ پنچ دوت ۔ پانچ روحانی یا اخلاقی دشمن۔ احساسات بد۔ رچ۔ محو۔ سنگت ۔ ساتھ ۔ صحبت۔ گوشٹ۔ خیال آرائی ۔ متوارو۔ محو۔ مد۔نشہ (4) بھگت وچھل ۔ بھگتوں کا پیارا ۔ لاج ۔ عزت۔ جیات۔
ترجمہ معہ تشریح:
دوڑتا ہے من ہر طرف دوڑتا ہے ۔ دنیاوی دؤلت کی لذتوں کے لالچ میں اور محبت میں محو ہے مگر خود خدا نے اسے گمراہ کیا ہوا ہے ۔ رہاؤ۔ الہٰی کہانیوں بیانات حمدوثناہ ۔ عبادت و ریاضت اور خدا رسیدوں کی صحبت و قربت میں ایک گھڑی پل کے لئے بھی اپنا دل نہیں لگاتا ۔ گل لالہ کے شوخ رنگ کو خوش ہوتا ہے اور دوسروں کے گھروں کی تاک میں رہتا ہے (1) نہ خدا سے محبت ہے نہ حقیقت پرستوں سے ۔ جس نے ختم ہوجانا ہے اسکے لئے رواں دواں ہے کئی طرقوں سے جیسے تلی کا بیل کو بلو کے گرو چکر کاٹتا ہے (2) نہ الہٰی نام سچ و حقیقت اور حقیقت اپنائی نہ خیرا تکی نہ زیارت نہ آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے حمدوثناہ ں عبادت وریاضت کی اور گئی قسم کے جھوٹ فریب سے دل کو خوش کرتا ہے ۔ حقیقت نہیں سمجھتا (3)
نہ کبھی دوسروں کی امداد کی نہ خدمت مرشد نہ الہٰی ریاضت پانچ انسانیت دشمن احساسات بد میں محواورصحبت وخیال آرائی میل ملاپ اور دنیاوی دولت کے نشے میں مدہوش رہتا ہے (4) اے نانک۔ صحبت و قربت پاکدامنوںمیں عرض گذارتا ہوں اور یہ سن کر کہ خدا اپنے عابدوں پریمیوں سے پیار کرتا ہے تیرے زیر سیاہ زیر پناہ آئیا ہوں ۔ اے خدا اب دور کر تیری پناہ لہٰی اب مجھے اپنا بناؤ اور میری عزت رکھیئے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
مانُکھُ بِنُ بوُجھے بِرتھا آئِیا ॥
انِک ساج سیِگار بہُ کرتا جِءُ مِرتکُ اوڈھائِیا ॥ رہاءُ ॥
دھاءِ دھاءِ ک٘رِپنس٘رمُکیِنواِکت٘رکریِہےَمائِیا॥
دانُ پُنّنُ نہیِ سنّتن سیۄاکِتہیِکاجِنآئِیا॥੧॥
کرِ آبھرنھ سۄاریِسیجاکامنِتھاٹُبنائِیا॥
سنّگُ ن پائِئو اپُنے بھرتے پیکھِ پیکھِ دُکھُ پائِیا ॥੨॥
سارو دِنسُ مجوُریِ کرتا تُہُ موُسلہِ چھرائِیا ॥
کھیدُ بھئِئو بیگاریِ نِیائیِ گھر کےَ کامِ ن آئِیا ॥੩॥
بھئِئو انُگ٘رہُجاکءُپ٘ربھکوتِسُہِردےَنامُۄسائِیا॥
سادھسنّگتِ کےَ پاچھےَ پرِئءُ جن نانک ہرِ رسُ پائِیا ॥੪॥੨॥੪॥
لفظی معنی :
بن بوجھے ۔ بغیر سمجھے ۔ برتھا۔ بیکار۔ بیفائدہ ۔ آئیا ۔ زندگی بیدار ہونا۔ ساچ سیگار۔ سجاوٹیں اور آراسگی ۔ جیو ۔ جیسے ۔ امرتک ۔ مرادہ۔ اوڈھائیا۔ بہنانا۔ رہاؤ۔ دھائے دھایئے ۔ دوڑ دوڑ کر ۔ کرپن۔ کنجواس۔ سرم۔ کو شش۔ محنت۔ مشقت کرکے ۔ کتر ۔ اکھٹی ۔ دان ۔ خیرات۔ پن ۔ ثواب۔ سنتن سیوا۔ خدمت روحانی رہنما و رہبر ۔ کت ہی کاج ۔ کسے کام (1) آبھرن ۔ زیور ۔ سیجا ۔ خوابگاہ ۔ کامن۔ عورت۔ تھاٹ بنائیا۔ سجاوٹ کی ۔ بھرے ۔ خاوند۔ مراد خدا ۔ پیکھ پیکھ ۔ دیکھ دیکھ ۔ (2) تو ہو۔ چھلکا ۔ وسیلہ ۔ موہلی ۔ چھرائیا۔ کوٹتا ۔ چھڑتا رہا ۔ کھیہہ۔ دکھ ۔ نیایں۔ کی مانند۔ طرح (3) انگریہہ۔ مہربانی ۔ تس۔ اس نے ہر وے ۔ دلمیں۔ نام۔ سچ بسائیا۔ پاچھے ۔ پیروی کرکے ۔ ہر رس ۔ الہٰی لطف۔
ترجمہ معہ تشریح:
زندگی کے مقسد کو سمجھے بغیر انسان کا اس دنای میں جنم لینا ہی بیکار اور بیفائدہ ہے ۔ زیادہ سجاوٹیں اور شنگار ایسے ہے جیسے مودے کو ہنسانا ہے ۔ رہاؤ۔ دوڑ دہوپ کرکے کنجوس محنت و مشقت سے دولت جمع کرتا ہے نہ خریات دیتا ہے نہ کار ثواب کرتا ہے نہ ہی خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبروں کی خدمت کرتا ہے ۔ لہذا وہ دولت اسکے کسی کام نہیں آتی (1) کوئی عورت اپنے آپ کو زیور پہن کر شنگار بناتی ہے اور خواب گاہ آراستہ کرتی ہے مگر خاوند کی صحبت و قربت نہ لی تو اسے دیکھ دیکھ کر تکلیف محسوس کرتی ہے (2) انسان سارا دن موہلی سے چاول کا چھلکا کوٹتا ہے محنت و مشقت کرتا ہے مراد بیکار بے نتیجہ کام کرتا ہے بیگاری کی مانند محنت و مشقتت تو کی مگر اپنے کام کچھ نہیں آتا (3) جس پر کی رحمت خدا نے اس نے اپنے دل میں نام الہٰی سچ بسائیا ۔ اے خادم نانک ۔ وہ پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں خدا کا لطف اُٹھاتا ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ک٘رِپانِدھِ بسہُ رِدےَ ہرِ نیِت ॥
تیَسیِ بُدھِ کرہُ پرگاسا لاگےَ پ٘ربھسنّگِپ٘ریِتِ॥ رہاءُ ॥
داس تُمارے کیِ پاۄءُدھوُرامستکِلےلےلاۄءُ॥
مہا پتِت تے ہوت پُنیِتا ہرِ کیِرتن گُن گاۄءُ॥੧॥
آگِیا تُمریِ میِٹھیِ لاگءُ کیِئو تُہارو بھاۄءُ॥
جو توُ دیہِ تہیِ اِہُ ت٘رِپتےَآننکتہوُدھاۄءُ॥੨॥
سد ہیِ نِکٹِ جانءُ پ٘ربھسُیامیِسگلرینھہوءِرہیِئےَ॥
سادھوُ سنّگتِ ہوءِ پراپتِ تا پ٘ربھُاپُنالہیِئےَ॥੩॥
سدا سدا ہم چھوہرے تُمرے توُ پ٘ربھہمرومیِرا॥
نانک بارِک تُم مات پِتا مُکھِ نامُ تُمارو کھیِرا ॥੪॥੩॥੫॥
لفظی معنی :
کرپاندھ ۔ مہربانیوں کے خزانہ ۔ ردے ۔ دل میں۔ نیت ۔ ہ روز۔ پرگاسا ۔ روشن۔ پربھ سنگ پریت۔ خدا سے پریم پیار ہوجائے ۔ رہاؤ۔ دہوار۔ دہول۔ خاک۔ مستک ۔ پیشانی ۔ مہاپتت۔ اخلاق سے گرہوا ۔ بھاری گناہگاار ۔ پیتا۔ پاک۔ نیک چلن (1) آگیا۔ اجازت ۔ فرمان۔ رضا۔ بھاوؤ۔ پسندآئے ۔ ترپتے ۔ تکسین پائی۔ آن۔ دیگر ۔ دھاوؤ۔ دوڑو ۔ بھٹکو (2) نکٹ ۔ نزدیک۔ اسگل رین ۔ سب کی دہول ۔ سادہو سنگت۔ صحبت پارسایاں ۔ لیئے ۔ حاصل ہوتا ہے (3) چھوہرے ۔ بچے ۔ میرا۔ مالک۔ مکہہ۔ منہہ۔ کھیرا ۔ دودھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے رحمان الرحیم ہمیشہ میرے دل میں بس الہٰی عقل میرے ذہن کو روشن کر میرا خدا سے محبت پیار ہوجائے ۔ رہاؤ۔ اے خدا تیرے خدمتگاروں کی دہول حاصل ہو اور اسے بطور عقیدت مندی اپنی پیشانی پر بطور تظیم و آداب لگاوں ۔ بھاری بدچلن بداخلاق نا پاک سے خوش اخلاق ۔ نیک چلن اور پاک و پائس ہو جاؤں ۔ اور الہٰی حمدوچناہ کرؤں () اے خدا تیری رضا و فرمان سے میرا پیار ہے ہو اور تیری کار دل کو اچھی لگے ۔ جو کچھ بھی مجھے اسی سے مجھے تسکین حاصل ہو کسی دوسری طرف میری دوڑ دہوپ نہ ہو (2) اے خدا مجھے ہمیشہ ساتھ اور نزدیک سمجھو اور سب کی کاک بنارہوں اور مجھے خدا رسیدگان کی جنہوں زندگی صراط مستقیم حآصل کر لیا ہے ۔ ان کی صحبت قربت حاصل ہوتاکہ اپنے خدا کو پالون (3) اے خدا ہم تمہارے چھوٹے بچے ہاں اور تو ہمارا مالک ہے ۔ اے نانک۔ ہم خدا کے بچے ہیں اور خدا ہی ہماری ماں اور باپ ہے جیسے ماں باپ اپنے بچے کو دود پلاتے ہیں ایسے ہی ہمارے منہ میں اپنا نام سچ اورحقیقت وحق ڈال ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫ گھرُ ੨ دُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
ماگءُ دانُ ٹھاکُر نام ॥
اۄرُکچھوُمیرےَ سنّگِ ن چالےَ مِلےَ ک٘رِپاگُنھگام॥੧॥ رہاءُ ॥
راجُ مالُ انیک بھوگ رس سگل ترۄرکیِچھام॥
دھاءِ دھاءِ بہُ بِدھِ کءُ دھاۄےَسگلنِرارتھکام॥੧॥
بِنُ گوۄِنّداۄرُجےچاہءُدیِسےَسگلباتہےَکھام॥
کہُ نانک سنّت رین ماگءُ میرو منُ پاۄےَبِس٘رام॥੨॥੧॥੬॥
لفظی معنی :
ماگؤ ۔ مانگتا ہوں ۔ دان ۔ خیرات۔ بھیک ۔ ٹھاکر۔ مالک ۔ نام سچ ۔ حق و حقیقت ۔ کچھ ۔ کچھ بھی ۔ سنگ ۔ ساتھ۔ کرپا۔ مہربانی سے ۔ گن گام۔ صفت صلاح (1) رہاؤ۔ راج مال۔ حکمرانی و دولت ۔ انک بھوگ رس۔ گئی قسم کے عیش و آسائش کے لطف و مزے ترور کی چھام۔ درخت کیا سایہ ۔ دھائے دھائے ۔ دوڑ دوڑ کر ۔ بہو بدھ۔ بہت سے طریقوں سے ۔ نرارتھ ۔ بیفائدہ ۔ بیکار ۔ سنت رین ۔ خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبر و رہنما کے پاؤں کی دہول ۔ وسرام ۔ سکون
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے مالک (خدا ) میں تیرے نام سچ حق و حقیقت کی تجھ سے خیرات مانگتا ہوں۔ اور کچھ انسان کے ساتھ نہیں جاتا وہی کرم وعنیات سے الہٰی حمدوثناہ کرتی ہے ۔ (1) رہاؤ۔ حکومت۔ دوتل ۔ سرامیہ اور طرح طرح کے عیشق و عشرت اور سامان آسائش سارے درخت کے سایہ کی ماندن ہیں ۔ انسنا بیشمار طریقوں سے ان کے حصول کے لئے دوڑ دہوپ کرتا ہے مگر سارے کام بیکار اور بیفائدہ ہیں (1) خدا کے بغیر دوسری تما مخواہشات نا پائدیاد ہیں ۔ اے نانک بتادے کہ پاک پائے خدا رسید گان رہنمائے روحانیجنہون الہٰی ملاپ کا صراط مستقیم پا لیا ہے اور دوسروں کی ملاپ کے لئے رہبری کرتے ہیں مانگتا ہوں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
پ٘ربھجیِکونامُمنہِسادھارےَ॥
جیِء پ٘رانسوُکھاِسُمنکءُبرتنِایہہمارےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
نامُ جاتِ نامُ میریِ پتِ ہےَ نامُ میرےَ پرۄارےَ॥
نامُ سکھائیِ سدا میرےَ سنّگِ ہرِ نامُ مو کءُ نِستارےَ ॥੧॥
بِکھےَ بِلاس کہیِئت بہُتیرے چلت ن کچھوُ سنّگارےَ ॥
اِسٹُ میِتُ نامُ نانک کو ہرِ نامُ میرےَ بھنّڈارےَ ॥੨॥੨॥੭॥
لفظی معنی :
پربھ جی کو نام۔ الہٰی نام۔ سچ حق وحقیقت ۔ من سادھارے ۔ دل کو راہ راست پر لاتا ہے ۔ جیئہ پران ۔ انسانی زندگی ۔ من کوبرتن ۔ دل کے کام آنے والی (1) رہاؤ۔ ذات۔ خاندان۔ پت۔ عزت۔ پروارے ۔ قیبلہ ۔ سکھائی۔ ساتھی ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ نستارے ۔ کامیاب بناتا ہے (1) وکھے بلاس۔ عیشق و عشرت کے طریقے اور سامان ۔ سنگارئے ۔ ساتھ ۔ اسٹ میت ۔ پیار ادوست۔ بھنڈارئے ۔ ذخیرہ ۔ خزانہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام ہی انسان کے من کو راہ راست پر لاتا ہے اور دل کے لئے یہی زندگی ہے اور یہی دل کے لئے یہی زندگی ہے اور یہی دل کے کام آنا وال اہے (1) رہاؤ۔ الہٰی نام ہی انسنا کی ذات عزت اور قبیلہ ہے ۔ نام ہی ساتھی ہے ہمیشہ ساتھ دینے وال اور الہٰی نام سے ہی کامیابی حاصل ہوتی ہے (1) یوں تو عیش و عشرت اور کے طریقے اور سامان بہشت ہیں مگر ساتھ کچھ نہیں جاتا۔ نانک کا سب سے پیار دوست الہٰی نام ہے اور اسی میں عقیدت ہے الہٰی نام ہی میرے لئے دولت کا خزانہ ہے ۔

ٹوڈیِ مਃ੫॥
نیِکے گُنھ گاءُ مِٹہیِ روگ ॥
مُکھ اوُجل منُ نِرمل ہوئیِ ہےَ تیرو رہےَ ایِہا اوُہا لوگُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
چرن پکھارِ کرءُ گُر سیۄامنہِچراۄءُبھوگ॥
چھوڈِ آپتُ بادُ اہنّکارا مانُ سوئیِ جو ہوگُ ॥੧॥
سنّت ٹہل سوئیِ ہےَ لاگا جِسُ مستکِ لِکھِیا لِکھوگُ ॥
کہُ نانک ایک بِنُ دوُجا اۄرُنکرنھےَجوگُ॥੨॥੩॥੮॥
لفظی معنی :
نیکے ۔ نیک۔ اچھے ۔ روگ ۔ بیماری ۔ مکھ اجل۔ سرخرو۔ من نرمل ۔ ۔ دل پاک ۔ ۔ ایہا اوہا۔ ہر دو عالموں میں (1) رہا ؤ ۔ پکھار۔ دہونا۔ جھاڑنا۔ منہہ ۔ من کو ۔ چراوؤ بوگ۔ دل کو بطور کھانا یا پر ساد بھینٹ کردوں ۔ آپت ۔ خودی پسندی ۔ باد۔ جھگرا۔ اہنکار۔ تکبر ۔غرور (1) نہل ۔ خدمت۔ مستک ۔ پیشانی پر ۔ لکھیا۔ تحریر ۔۔ جوگ۔ توفیق رکھنے والا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اچھی نیک حمدوثناہ سے تمام بیماریاں ختم ہو جاتی ہیں۔ ہر دو عالموں میں چہرہ سرخ پر جلال اور دل پاک رہتا ہے ۔ انسان کا (1) رہاؤ۔ مرشد کے پاؤں دہو اور خدمت کرؤ اور اپنا بطو ر بھینٹ کر دو مراد اسکی فرمانبرداری کرؤ خودی پسندی ۔ جھگڑو غرور وتکبر چھو ڑ کہ الہٰی رضا میں راضی رہو (1) خدمت روحانی رہبر میں وہی لگتا ہے خدمت وہی کرتا ہے جس کی قسمت میں خدا کا اسکے اعمالنامے میں تحریر کیا ہوتا ہے ۔ اے نانک بتادے واحد خدا کے علاوہ کسی دوسرے میں اسکی توفیق نہیں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ستِگُر آئِئو سرنھِ تُہاریِ ॥
مِلےَ سوُکھُ نامُ ہرِ سوبھا چِنّتا لاہِ ہماریِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
اۄرنسوُجھےَدوُجیِٹھاہرہارِپرِئوتءُدُیاریِ॥
لیکھا چھوڈِ الیکھےَ چھوُٹہ ہم نِرگُن لیہُ اُباریِ ॥੧॥
سد بکھسِنّدُ سدا مِہرۄاناسبھنادےءِادھاریِ॥
نانک داس سنّت پاچھےَ پرِئو راکھِ لیہُ اِہ باریِ ॥੨॥੪॥੯॥
لفظی معنی :
سوبھا۔ نیک شہرت۔ چنتا۔ فکر ۔ تشویش ۔ لاہے ۔ متائے (1) اور ۔ دیگر ۔ دوسری ۔ ٹھاہر۔ ٹھکانہ ۔ ہار۔ ماند پڑ کر۔ توؤ۔ تیری ۔ وآری ۔ دروازے پر۔ لیکھا۔ حساب اعمال ۔ الیکھے ۔ بلاحساب ۔ نرگن ۔ بے اوصاف۔ لیہو ابھاری ۔ بچاؤ (1) سد نحسند۔ ہمیشہ معاف کرنے وال ابخشش کرنے والا۔ ادھاری ۔ آسرا۔ سنت پاچھے ۔ روحانی رہنما کی پشت پناہ ۔ ایہہ باری ۔ اس دفعہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچے مرشد کی پشت پناہی سے آرام الہٰی نام سچ حق وحقیقت و شہرت ملتی ہے اور فکر و تشویش مٹ جاتی ہے (1) رہاؤ۔ دوسری کوئی ٹھکانہ سمجھ میں نہیں آتا آخر کار تھ ہار کر تیرے در پر آیا ہوں۔ حسابا اعمالنامہ چھوڑ کر بلا حساب ہی نجات مل سکتی ہے ہم بے اوصافوں کو بچالو ۔ خدا رحمان الرحیم اور مرہبان ہے سب کو اپنا آسرا دیتا ہے ۔ خادم خدا ناک عرض گذار ۔ کہ میں روحانی رہنما و رہبر کی پشت پناہ میں ہوں مجھے اس دفعہ بچا لو۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
رسنا گُنھ گوپال نِدھِ گائِنھ ॥
ساںتِ سہجُ رہسُ منِ اُپجِئو سگلے دوُکھ پلائِنھ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جو ماگہِ سوئیِ سوئیِ پاۄہِسیۄِہرِکےچرنھرسائِنھ॥
جنم مرنھ دُہہوُ تے چھوُٹہِ بھۄجلُجگتُترائِنھ ॥੧॥
کھوجت کھوجت تتُ بیِچارِئو داس گوۄِنّدپرائِنھ॥
ابِناسیِ کھیم چاہہِ جے نانک سدا سِمرِ نارائِنھ ॥੨॥੫॥੧੦॥
لفظی معنی :
رسنا۔ زبان ۔ گن گوپال۔ اوصاف الہٰی ۔ سانت ۔ سکون ۔ سہج ۔ مستقل مزاجی ۔ روحانی یا ذہنی سکون ۔ رہں۔ تحمل۔ بلائن۔ چلے جانا (1) راہؤ۔ رسائن ۔ لطفوں کاخزانہ ۔ بھؤجل۔ دنیاوی زندگی جو ایک خوفناک سمندر کی مانند ہے۔ تت ۔ حقیقت ۔ اصلیت۔ داس۔ گوبند پرائن۔ خادمان خدا کے سہارے زندگی گذارتے ہیں۔ ابناسی ۔ لافناہ ۔ کھم۔ خوشحالی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان ۔ زبان سے الہٰی حمدوثناہ کر نے سے سکون ذہنی سکون تحمل مستقل مزاجی دل میں پیدا ہوتی ہے تمام عذآب بھاگ جاتے ہیں (1) رہاؤ۔ خدمت خدا تمام طفوں کی کان ہے ۔ اس سے تناسخ سے نجات ملتی ہے ۔اور دنیاوی زندگی جو ایک خوفناک سمندر کی مانند ہے پر عبور حاسل ہوتا ہے (1) اصلیت کی تلاش کرتے کرتے اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ خادمان خدا کی زندگی خدا کے سہارے ہے مراد وہ حقیقت کی تالش کے متلاشی ہیں۔ اے نانک۔ اگر صدیوی خوشحالی چاہتے ہو تو خدا کو یاد کرؤ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
نِنّدکُ گُر کِرپا تے ہاٹِئو ॥
پارب٘رہمپ٘ربھبھۓدئِیالاسِۄکےَ بانھِ سِرُ کاٹِئو ॥੧॥ رہاءُ ॥
کالُ جالُ جمُ جوہِ ن ساکےَ سچ کا پنّتھا تھاٹِئو ॥
کھات کھرچت کِچھُ نِکھُٹت ناہیِ رام رتنُ دھنُ کھاٹِئو ॥੧॥
بھسما بھوُت ہویا کھِن بھیِترِ اپنا کیِیا پائِیا ॥
آگم نِگمُ کہےَ جنُ نانکُ سبھُ دیکھےَ لوکُ سبائِیا ॥੨॥੬॥੧੧॥
لفظی معنی :
تند ک ۔ بد گوئی کرنے والا۔ گر کرپا۔ رحمت مرشد۔ اویا لا ۔ مہربان ۔ سو کے بان ۔ نہ خطا ہونے والے ۔ (1) رہاؤ۔ کال جال۔ موت کا جال۔ جم ۔ فرشتہ موت۔ جوہ ۔ تاک ۔ اخطار۔ سچ ۔ حقیقت ۔ پنتھا ۔ راستہ ۔ تھائیو ۔ اختیار کیا ہے ۔ کھات ۔ فرچت ۔ کھانے اور خرچنے سے ۔ لکھٹت ۔ ناہی ۔ کمی واقع نہیں ہوتی ۔ رام رتن۔ الہٰی ہیرا ۔ دھن۔ سرمایہ۔ کھائیؤ ۔ کمائیا ہے (1) بھسما بھوت۔ رکاھ ہو گیا۔ کھن بھیتر۔ تھوڑے سے وقفے میں۔ اگمانگم ۔ وہ ذہانت جس تک انسانی ذہن رسائی حآصل نہ کر سکے ۔ سبائیا۔ سارے ۔ لوک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بد گوئی کرنے والا رحمت مرشد سے بد گوئی کرنے سے باز آجاتا ہے ۔ جس بد گوئی کرنے والے پر پرودرگار مہربان ہوجات اہے ۔ اپنی کرم و عنایت سے روآحنی سبق سے جو ایک تیر کی مانند ہوتا ہے اس کی خودی دور کر دیتا ہے (1) رہاؤ۔ روحانی موت اس کی طرف اپنی نظر نہیں کرتی وہ حقیقی اور اسلی راہیں ااختیار کر لیتا ہے ۔ وہ ایسا الہٰی نام کی دولت کماتا ہے جو نہ کھانے سے نہ خرچنے سے کم ہوتی ہے (1) جس عادت کی وجہ سے وہ ذلیل وخوآر ہوتا تھا ۔ تھوڑے سے وقفے میں ہی رحمت مرشد سے اسکا نام و نشان مٹ جاتا ہے ۔ اس حیران گرنے والی تبدیلی ۔ سارا علام ویکھتا ہے خادم نناک بیان کرتا ہے کہ نانک ایسا کھیل ہے جس تک انسانی زہنی رسائی اور ذہانت نہیں پہنچ سکتی ۔ سارے لوگ اور عالم حیرانی سے دیکھتا ہے ۔

ٹوڈیِ مਃ੫॥
کِرپن تن من کِلۄِکھبھرے॥
سادھسنّگِ بھجنُ کرِ سُیامیِ ڈھاکن کءُ اِکُ ہرے ॥੧॥ رہاءُ ॥
انِک چھِد٘ربوہِتھ کے چھُٹکت تھام ن جاہیِ کرے ॥
جِس کا بوہِتھُ تِسُ آرادھے کھوٹے سنّگِ کھرے ॥੧॥
گلیِ سیَل اُٹھاۄتچاہےَاوءِاوُہاہیِہےَدھرے॥
جورُ سکتِ نانک کِچھُ ناہیِ پ٘ربھراکھہُسرنھِپرے॥੨॥੭॥੧੨॥
لفظی معنی :
کرپن۔ کنجوس۔ تن من ۔ دل و جان۔ کل وکھ۔ گناہگاریوں ۔ پردہ پوشی (1) رہاؤ۔ انک۔ بیشمار۔ چھدر۔ سوراخ۔ لوہتھ ۔ جہاز ۔ چھٹگت۔ چھوٹے جائیں۔ تھام۔ رک ۔ کرے ۔ ہاتھوں سے ۔ تس۔ اسے ۔ آرادھے ۔ یاد کرے ۔ کھوٹے ۔ بیکار ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ کھرے ۔ درست (1) سیل ۔ پتھر۔ زور۔ طاقت۔
ترجمہ معہ تشریح:
من کر الہٰی کا دل وجان گناہگایوں سے بھر گیا ہوتا ہے ۔ صحبت و قربت پارسایاں و پاکدامن میں عبادت وریاضت کرنے سے خدا پر دہ پوشی کرتا ہے ۔ رہاؤ۔ اگر جہاز میں بہت سے سوراخ ہوجائیں تو ہاتھوں سے انہیں اکاوٹ ڈالی نہیں جا سکتی ۔ اگر مالک جہاز سے دعا کیجائے تو اسکی محبت میں کھوئے کھرے ہوجاتے ہیں۔ مراد جس مالک نے یہ انسانی جسم عنایت فرمائیا ہے جس میں بیشمار کمزوریاں ہیں۔ ان کو اس بخشش کر نے والے سے استدعا کرنے سے ہی دور ہو سکتی ہیں۔ باتوں سے ہی پہار یا پتھر کی بھاری چٹانیں اُٹھائی نہیں جا سکیں۔ اے نانک۔ ہمارے اندر اتنی توفیق برکت اور اور قوت نہیں خدا سے ہی التجا اور درخواست ہے کہ ہم نے تیری پشت پناہ لی ہے تو ہی بچا۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ہرِ کے چرن کمل منِ دھِیاءُ ॥
کاڈھِ کُٹھارُ پِت بات ہنّتا ائُکھدھُ ہرِ کو ناءُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
تیِنے تاپ نِۄارنھہارادُکھہنّتاسُکھراسِ॥
تا کءُ بِگھنُ ن کوئوُ لاگےَ جا کیِ پ٘ربھآگےَارداسِ॥੧॥
سنّت پ٘رسادِ بیَد نارائِنھ کرنھ کارنھ پ٘ربھایک॥
بال بُدھِ پوُرن سُکھداتا نانک ہرِ ہرِ ٹیک ॥੨॥੮॥੧੩॥
لفظی معنی :
چرن کمل۔ پائے مقدس۔ دھیاؤ۔ بساو۔ کھٹار۔ کلہاڑا۔ پت۔ پتہ ۔ گرمی۔ بات۔ وایو۔ ہنتا ۔ ختم کرنے والی ۔ اؤکھد۔ دوائی (1) رہاؤ۔ تنو تاپ۔ ادھ ۔ پیادھ ۔ اپادھ ۔ ذہنی ۔ جسمانی اور جھگڑے ۔ راس۔ سرمایہ۔ وگھن۔ رکاوٹ (1) سنت پرساد۔ رحمت مرشد سے ۔ ارداس۔ گذارش (1) کرن کارن۔ سبب بنانے والا اور کرنے والا ۔ وید ۔ حکیم ۔ ڈاکٹر ۔ پربھ ایک۔ اح خدا۔ بال بدبھ ۔ بچوں جیسی سمجھ مراد بغیر چالاکی و ہوشیاری کے ۔ ٹیک۔ آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
پائے مقدس الہٰی کا دل میں دھیان کرؤ ۔ الہٰی نام ایک ایسی دوائی ہے جو غصہ اور غرور جیسے کلہاڑ اکاٹ کرتاہے ۔ ایسے ہی یہ اکیسر دوائی ختم کر دیتی ہے (1) رہاؤ۔ تینوں قسم کی زہنی جسمانی اور دنیاوی جھگڑے دور کرنے والا تمام عزآب مٹآنے والا اور آرام و آسائش کا سرمایہ ہے جو عرض و گذارش کرتا ہے پاک خدا سے اسے رکاوٹ کوئی آتی نہیں۔ جس پر ہو رحمت روحانی رہبر کی حکیم ہے ۔ اسکا واحد خدا کرنے اور کرانے والا ہے ۔ اے نانک۔ سادی عقل و ہوش ۔ ( ہے اسکا) سے جو دل سے چالاکیاں دور کر لیتے ہیں خدا انک کی زندگی کا سہار اہوجاتا ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ہرِ ہرِ نامُ سدا سد جاپِ ॥
دھارِ انُگ٘رہُپارب٘رہمسُیامیِۄسدیِکیِنیِآپِ॥੧॥ رہاءُ ॥
جِس کے سے پھِرِ تِن ہیِ سم٘ہ٘ہالےبِنسےسوگسنّتاپ॥
ہاتھ دےءِ راکھے جن اپنے ہرِ ہوۓمائیِباپ॥੧॥
جیِء جنّت ہوۓمِہرۄانادزادھاریِ ہرِ ناتھ ॥
نانک سرنِ پرے دُکھ بھنّجن جا کا بڈ پرتاپ ॥੨॥੯॥੧੪॥
لفظی معنی :
ہر نام ۔ خدا کا نام۔ سچ وحقیقت۔ سدا سد۔ ہمیشہ ۔ جاپ یاد کر یاد رکھ ۔ انگریہہ۔ کرم وعنایت فرما ۔ پار برہم سوآمی ۔ پار لگانے والے مالک۔ ماد کامیابی بخشنے والے خدا ۔ دسدی ۔ آباد (1) رہاؤ۔ اپنی امداد سے (1) دکھ بھنجن۔ عذآب مٹانے والا۔ وڈپر تاپ۔ بھاری آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان ہمیشہ کدا کے نام سچ و حقیقت یاد کیا کر خدا اسے اپنی کرم و عنیات سے ذہانت و سمجھداری عنایت کرتا ہے (1) رہاؤ۔ جسکا مالک ہے خود خدا اسکے عذاب اور غمگینیاں دور کر دیتا ہے ۔ جس پر مہربان خود خدا ساری مخلوقات مہربان ہوجاتی ہے ۔ اے نانک۔ اس عالی وقار عذآب مٹانے والے کی پشت پناہ حاصل کی ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
س٘ۄامیِسرنِپرِئودربارے॥
کوٹِ اپرادھ کھنّڈن کے داتے تُجھ بِنُ کئُنُ اُدھارے ॥੧॥ رہاءُ ॥
کھوجت کھوجت بہُ پرکارے سرب ارتھ بیِچارے ॥
سادھسنّگِ پرم گتِ پائیِئےَ مائِیا رچِ بنّدھِ ہارے ॥੧॥
چرن کمل سنّگِ پ٘ریِتِمنِلاگیِسُرِجنمِلے پِیارے ॥
نانک اند کرے ہرِ جپِ جپِ سگلے روگ نِۄارے॥੨॥੧੦॥੧੫॥
لفظی معنی :
سوآمی ۔ اے مالک۔ کوٹ ۔ کروڑوں۔ اپرادھ ۔ گناہ ۔ کھنڈن۔ مٹانے ۔ ادھار ے بچائے (1) رہاؤ۔ ۔کھوجت ۔ ڈہونڈتے ۔ تلاش کرتے ۔ بہو پر کارے ۔ کئی طرح سے ۔ سرب ارتھ بچارے ۔ ہر طرح سے سوچ کر ۔ سادھ سنگ ۔ صحبت پارسایاں ۔ پرم گت۔ بلندر روحانی واخلاقی حالت و رتبہ ۔ مائیا رچ۔ دنیاوی دوتل میں محو۔ بندھ۔ غلامی ۔ ہارے ۔ شکست ۔ ناکامی (1) سرجن۔ ہم خیال۔ انند۔ ہر طرح سے سکون ۔ سگلے روگ۔ تمام بیماریاں ۔ نوارے ۔ دور کئے ۔ مٹائے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے آقا میں تیرے دربار کی پشت پناہ حاصل کی ہے ۔ تو کروڑوں گناہ مٹآنے کی توفیق رکھتا ہے تیرے بغیر کون بچانے والا ہے (1) رہاؤ۔ کئی طرح کی سوچ وچار اور تلاش کرکے یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ پارساوں خدا رسیدہ روحآنی رہبر کی صحبت و قربت سے بلند روحانی واخلاقی رتبہ و روحانی واخلاقی طرز زندگی میسر ہوتی ہے ۔ دنیاوی دولت کی غلامی میں انسان کو روحانی واخلاقی طور پر پسماندگی اور شکست خوردہ زندگی ہوجاتی ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫ گھرُ ੩ چئُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
ہاں ہاں لپٹِئو رے موُڑ٘ہ٘ہےکچھوُنتھوریِ ॥
تیرو نہیِ سُ جانیِ موریِ ॥ رہاءُ ॥
آپن رامُ ن چیِنو کھِنوُیا ॥
جو پرائیِ سُ اپنیِ منوُیا ॥੧॥
نامُ سنّگیِ سو منِ ن بسائِئو ॥
چھوڈِ جاہِ ۄاہوُچِتُلائِئو॥੨॥
سو سنّچِئو جِتُ بھوُکھ تِسائِئو ॥
انّم٘رِتنامُتوسانہیِپائِئو॥੩॥
کام ک٘رودھِموہکوُپِپرِیا॥
گُر پ٘رسادِنانککوترِیا॥੪॥੧॥੧੬॥
لفظی معنی :
پسٹیو۔ محبت ہے ۔ موڑھے ۔ جاہہل۔ بیوقوف۔ کچھو ۔ کچھ بھی ۔ تھوڑی ۔ تیری (1) رہاؤ۔چینے کھنوا۔ ذرا سی پہچنا نہ کی ۔ پرائی ۔ بیگانی ۔ اپنی منوا۔ اسے دل میں اپنی خیال کی () نام۔ سچ وحقیقت۔ سنگی ۔ ساتھی ۔ دسائیو بٹھائیا۔ داہو۔ اس سے ۔ چت لائیو۔ محبت (2) سنچیؤ۔ اکھٹی کرتا ہے ۔ جت بھوکھ تسا ہو۔ بھوک پیاس بنتی رہتی ہے ۔ انمرت نام ۔ آب حیات سچ وحقیقت ۔ توسا۔ خزانہ (3) کام ۔ شہوت۔ کرودھ ۔ غسہ۔ کوپ۔ کنوآں۔ ترپا۔ کامیابی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے نادان دل جس سے ہے تیری محبت اس میں کچھ بھی تیرا نہیں جو تیری انہیں اسے سمجھتا ہے میری (1) رہاؤ۔ اپنے کدا کی نہیں پہچان کبھی ۔ بیگانی کو سمجھے اپنی اے دل (1) الہٰی نام سچ وحقیقت جو انسان کا حقیقی ساتھی ہے دلمیں نہیں بسائیا۔ جو چھڑ چلے جانا ہے ۔ اسے دل اسمیں لگائا (2) ایسا سامان کیا ہے اکھٹا جس سے بھوک پیاس ہے بڑھتی ۔ روحانی واخلاقی زندگی کعنایت کرتا ہے ۔ آب حیات جو زندگی کے سفر کا ہے خرچا حاصل نہیں کیا (3) اے نانک۔ شہوت اور غصے کے کوئیںمیں پڑ کر کوئی شاذ و نادر ہی رحمت مرشد سے کامیابی پاتا ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ہمارےَ ایکےَ ہریِ ہریِ ॥
آن اۄرسِجنْانھِنکریِ॥ رہاءُ ॥
ۄڈےَبھاگِ گُرُ اپُنا پائِئو ॥
گُرِ مو کءُ ہرِ نامُ د٘رِڑائِئو॥੧॥
ہرِ ہرِ جاپ تاپ ب٘رتنیما॥
ہرِ ہرِ دھِیاءِ کُسل سبھِ کھیما ॥੨॥
آچار بِئُہار جاتِ ہرِ گُنیِیا ॥
مہا اننّد کیِرتن ہرِ سُنیِیا ॥੩॥
کہُ نانک جِنِ ٹھاکُرُ پائِیا ॥
سبھُ کِچھُ تِس کے گ٘رِہمہِآئِیا॥੪॥੨॥੧੭॥
لفظی معنی :
آن ۔ دیگر۔ دوسرے ۔ سبھان۔ پہچان۔ رہاؤ۔ وڈے بھاگ۔ بلند قسمت۔ سے ۔ درڑاہو۔ پختہ کرائیا (1) جاپ ۔ ریاض ۔ تاپ۔ تپسیا۔ ورت۔ پر ہیز گاری ۔ نیما۔ رز مرہ ۔ کسل۔ کھما ۔ خوشحالی ۔ خیرو عافیت (2) اچار۔ چا ل چلن ۔ بیو ہار۔ روز مرہ کے کام ۔ روز کا برتاؤ۔ گنیا۔ اوصاف۔ سنیا۔ سننے سے ۔ گریہہ۔ گھر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہمارا خدا وا حد ہے دوسرے کسی کی اسکے علاوہ پہچان نہیں۔ رہاو۔ بلند قسمت سے مجھے مرشد مل گیا ہے اور مرشد نے مجھے اپنی نام سچ حقیقت پختہ طور پر دل میں بسادیا (1) الہٰی ریاض عبادت پرہیز گاری اور روزانہ زندگی کے مذہبی عقیدے الہٰینام ہے ۔ الہٰی یاد سے ہر طرح کی خوشحالی ہوتی ہے (2) الہٰی حمدوثناہ ہی مذہبی رسم و رواج کی ادائیگی اور ذات ہے الہٰی صفت صلاح سننے سے دل کو سکون ملتا ہے (3) اے نانک بتادے کہ جسکا ملاپ خدا کا پالیا اسکے دنیا کی ہر شے حاصل ہو گئی ۔
ٹوڈیِ مہلا ੫ گھرُ ੪ دُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
روُڑو منُ ہرِ رنّگو لوڑےَ ॥
گالیِ ہرِ نیِہُ ن ہوءِ ॥ رہاءُ ॥
ہءُ ڈھوُڈھیدیِ درسن کارنھِ بیِتھیِ بیِتھیِ پیکھا ॥
گُر مِلِ بھرمُ گۄائِیاہے॥੧॥
اِہ بُدھِ پائیِ مےَ سادھوُ کنّنہُ لیکھُ لِکھِئو دھُرِ ماتھےَ ॥
اِہ بِدھِ نانک ہرِ نیَنھ الوءِ ॥੨॥੧॥੧੮॥
لفظی معنی :
روڑد۔ خوبصورت۔ رنگین مزاج۔ ہر رنگو۔ الہٰی پریم ۔ پیار ۔ لوڑے ۔ چاہتا ہے ۔ گالی ۔ باتؤں سے ۔ یہ نیہہو۔ الہٰی پیار۔ رہاؤ۔ ہؤ۔ میں ۔ ڈہونڈیدی ۔ تلاش۔ درسن۔ دیدار۔ بیتھی بیتھی ۔ گلی گلی ۔ پیکھا۔ ڈہونڈا۔ بھرم۔ وہم وگمان (1) ایہہ بدھ ۔ یہ طریقہ ۔ سادہو کہو۔ خدا رسیدہ سے ۔ ماتھے پیشانی ۔ نین الوئے ۔ آنکھوں دیکھا۔
ترجمہ معہ تشریح:
رنگین مزاج من کو الہٰی پریم پیار کی ضرورت ہے ۔ مگر صرف باتوں سے پیار حاصل نہیں ہو سکتا ۔ رہاؤ۔ میں دیدار کے لئے گلی گلی ڈہونڈا مگر مرشد کے ملاپ سے وہم وگمان مٹتا ہے (مراد ریاضت وعبات ) (1) یہ عقل شعور روحانی رہبر سے حاصل ہوا جیسا کہ بارگاہ الہٰی سے میری پیشنای یا مقدر مین تحریر تھا ۔ نانک ۔ اس طرح میں اپنی انکھوں سے دیدار کرلیا۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
گربِ گہِلڑو موُڑڑو ہیِئو رے ॥
ہیِئو مہراج ریِ مائِئو ॥
ڈیِہر نِیائیِ موہِ پھاکِئو رے ॥ رہاءُ ॥
گھنھو گھنھو گھنھو سد لوڑےَ بِنُ لہنھے کیَٹھےَ پائِئو رے ॥
مہراج رو گاتھُ ۄاہوُسِءُلُبھڑِئونِہبھاگڑو بھاہِ سنّجوئِئو رے ॥੧॥
سُنھِ من سیِکھ سادھوُ جن سگلو تھارے سگلے پ٘راچھتمِٹِئورے॥
جا کو لہنھو مہراج ریِ گاٹھڑیِئو جن نانک گربھاسِ ن پئُڑِئو رے ॥੨॥੨॥੧੯॥
لفظی معنی :
گرپ ۔ غرور۔ تکبر۔ گہلڑو ۔ گہلا۔ دیوانہ ۔ موڑڑد۔ موٹھ ۔ بیوقوف۔ جاہل۔ پیؤ ۔ ہردا۔ دل ۔ محراج ری مائیو۔ کدا کی مائیا ڈیہر۔ نیائیں۔ مچھکی مانند۔ مووہ پھانکیؤ۔ محبت میں پھنسا لیا ۔ رہاؤ۔ ہمیشہ زیادہ ہی زیادہ ضرور ت مند ہے چاہتا ہے مگر جب واجب ال ادا نہیں تو کیسے حآصل ہو۔ لہنے ۔ واجب ال ادا۔ کیٹھے کیسے ۔ پاہؤ ۔ ملے ۔ گاتھ ۔ جسم۔ واہو۔ ساتھ۔ لبھڑیؤ۔ لالچ کرتا ہے ۔ نیہا گڑو۔ بد قسمت۔ بھاہے ۔ آگ۔ سنجوہو۔ ( لگا رکھا ہے ۔ بھاہے ۔ سنچورے ۔ مراد خواہشا ت کی آگ جعمع کر رکھی ہے (1) سیکھ سادہو ۔ پندو نصائح خدا رسیدہ روحانی رہبر۔ سگلو ۔ سارے ۔ تاھرے ۔تیرے ۔ پراچھت۔ گنہا۔ گاٹھڑالو۔ گٹھڑی میں۔ گربھاس۔ تناسخ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا دیوانہ دل تکبر اور غرور میں پاگل ہو رہا ہے دنیاوی دولت کی محبت میں اے خدا جیسے مچھلی پھسنی ہوتی ہے ۔ رہاؤ۔ میرا دل ہمیشہ زیادہ اور زیادہ مانگتا ہے مگر جب واجب ال ادا ہی ہی نہیں کیسے ملیگا۔ خدا نے انسان کو یہ جسم عنایت کیا ہے ۔ اسکا لالچ کرتا ہے اس سے محبت کرتا ہے بد قسمت نے خواہشاتکی آگ جمع کر رکھی ہے (1) اے دل سن روحانی خدا رسیدہ رہبر سے سبق واعظ اور پندونصائح لے اکہ تیرے سارے گناہ عافو ہو جائیں۔ اے خادم نانک بتادے کہ جس کے اعمالنامے میں کچھ واجب الا داد تحریر ہے وہ تناسک اور لیت و لعل میں نہیں پڑتا ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫ گھرُ ੫ دُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ ॥
ایَسو گُنُ میرو پ٘ربھ جیِ کیِن ॥
پنّچ دوکھ ارُ اہنّ روگ اِہ تن تے سگل دوُرِ کیِن ॥ رہاءُ ॥
بنّدھن تورِ چھورِ بِکھِیا تے گُر کو سبدُ میرےَ ہیِئرےَ دیِن ॥
روُپُ انروُپُ مورو کچھُ ن بیِچارِئو پ٘ریمگہِئوموہِہرِرنّگبھیِن ॥੧॥
پیکھِئو لالنُ پاٹ بیِچ کھوۓاندچِتاہرکھےپتیِن॥
تِس ہیِ کو گ٘رِہُسوئیِپ٘ربھُنانکسوٹھاکُرُتِسہیِکودھیِن॥੨॥੧॥੨੦॥
لفظی معنی :
خدا نے مجھ پر ایسی کرم وعنایت اور بخشش فرمائی کر پانچوں احساسات بد اور تکبر کی وبا میرے جسم سے سارے مٹآ دییئے ۔ رہاؤ۔ گن ۔ بکشش۔ کین ۔ کیا ۔ نچ دوکھ ۔ پانچوں احساسات بد۔ شہوت۔ غصہ ۔لال ۔ محبت اور غرور۔ اہنگ۔ گھمنڈ۔ رہاؤ۔ بندھن۔ غلامی ۔ چھور وکھیانے اور ہر یلی دولت سے آزاد کر کے ۔ گر کو سبد۔ کلام با سبق مرشد۔ ہیرے دین ۔ دلمیں بسائیا۔ روپ انروپ ۔ شکل وصورت ۔ نہ وچاریؤ ۔ خیال کیا۔ ہر رنگ بھین ۔ مجھے پانا پیار عنیات کیا (1) پیکھؤ ۔ دیدار کیا۔ پاٹ۔ پردہ ۔ سچ ۔ درمیان ۔ کھوئے مٹائے ۔اندجتا۔ دل کو سکون ۔ ہر کھے ۔ خوشی ۔ پیش ۔ تسلی ہوئی ۔ تکسین ملا۔ دھن۔ زیر فرامن۔ تابعدار ۔ت س۔ اس۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا نے مجھ پر ایسی عیشق و کرم وعنیات کی ہے کر پانچوں بد احساسات انسانیت دشمن گناہگاریاں اور تکبر کی وبا میرے ذہن و جسم سے مٹا دیئے ۔ رہاؤ۔ خدا نے مجھے دنیاوی دولت کی غلامی سے آزادی دلا دی اور سبق و واعظ و کلام مرشد میرے دل میں بسادیا۔ میری شکل وصورت خوبصورتی اور بد صورت کا خیال نہ کرکے مجھے اپنی محبت کی گرفتمیں اپنا گرویدہ بنا لیا (1) اے نانک بتادے ۔ جب درمیانی پردے میرے خدا کے دور ہوئے تو دل کو تسکین ملی دل خوشیوں سے بھر گیا اور مخمور ہوگیا یہ دل و دماغ اور جسم اسی کا دہیی مالک اسی کا اب خادم ہوں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
مائیِ میرے من کیِ پ٘ریِتِ ॥
ایہیِ کرم دھرم جپ ایہیِ رام نام نِرمل ہےَ ریِتِ ॥ رہاءُ ॥
پ٘رانادھارجیِۄندھنمورےَدیکھنکءُدرسنپ٘ربھنیِتِ॥
باٹ گھاٹ توسا سنّگِ مورے من اپُنے کءُ مےَ ہرِ سکھا کیِت ॥੧॥
سنّت پ٘رسادِبھۓمننِرملکرِکِرپا اپُنے کرِ لیِت ॥
سِمرِ سِمرِ نانک سُکھُ پائِیا آدِ جُگادِ بھگتن کے میِت ॥੨॥੨॥੨੧॥
لفظی معنی :
پریت۔ پیار ۔ کرم۔ اعمال۔ دھرم۔ مذہبی فرائض ۔ رام نام ۔ خدا کا نام۔ جپ۔ ریاض۔ نرمل۔ پاک ۔ ریت۔ رسم۔ رہاؤ۔ پران ادھار۔ زندگی سہارا۔ جیون دھن۔ زندگی کی دوتل درسن ۔ دیدار۔ نیت ۔ میشہ۔ بات۔ راستہ ۔گھاٹ ۔ دربار کا کنارہ ۔ پتن۔ جہاں سے کشی چلتی ہے ۔ توسا۔ رہاداری کا خچرہ ۔ سکھا کیت۔ ساتھی بنالیا (1) سنت پرساد۔ ۔ رحمت روحانی رہبرکے ۔ اپنے کر لیت ۔ اپنا بنالیا ۔ آد۔ آغاز سے ۔ جگاد ۔ جب سے دور ۔ زماں شروع ہوا ۔ بھگتن۔ الہٰی پریمیوں ۔ میت ۔ دوست۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ماں میرے دل مین محبت ہے ۔ یہی اعمال یہی ریاض و عبادت یہی الہٰینام پاک رسم ہے ۔ رہاؤ۔ زندگی کا آسرا ۔ اور سرمایہ میرے لئے دیدار الہٰی ہے غرض یہ کہ راستے دریا کی گھاٹ اور سفر خرچ میرے لئے الہٰی محبت ہے اور اسے ہی اپنا ساتھی بنائیا ہے (1) رحمت روحانی رہبر میرا دل پاک ہویگیا ہے ۔ اور مجھے اپنالیا ہے ۔ اے نانک ہر دور زمان میں الہٰی پرمیوں کے دور ست خدا کی یاد سے آرام و آسائش سے ملا ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
پ٘ربھجیِمِلُمیرےپ٘ران॥
بِسرُ نہیِ نِمکھ ہیِئرے تے اپنے بھگت کءُ پوُرن دان ॥ رہاءُ ॥
کھوۄہُبھرمُراکھُمیرےپ٘ریِتمانّترجامیِسُگھڑسُجان॥
کوٹِ راج نام دھنُ میرےَ انّم٘رِتد٘رِسٹِدھارہُپ٘ربھمان॥੧॥
آٹھ پہر رسنا گُن گاۄےَجسُپوُرِاگھاۄہِسمرتھکان॥
تیریِ سرنھِ جیِئن کے داتے سدا سدا نانک کُربان ॥੨॥੩॥੨੨॥
لفظی معنی :
وسر ۔ بھول ۔ ہیرے ۔ دل سے ۔ پورن دان۔ مکمل خیرات (1) رہاؤ۔ کھودہو۔ مٹاؤ۔ بھرم۔ وہم وگمان ۔ بھٹکن ۔ انتر جامی ۔ اندرونی راز جاننے والا۔ سگھڑ سجان ۔ بھاری دانمشند ۔ کوٹ راج کروڑوں بادشاہیان ۔ حکمرانیاں۔ انمرت درسٹ۔ آب حیات ۔ بھری نظر۔ نگاہ شفقت۔ دھارہو۔ اپنا ؤ (1) رسنا۔ زبان جس ۔ ستائش ۔ حمدو ۔ گھاویہہ۔ تکسین پائے ہیں۔ سرن ۔ پشت پناہ۔ جیئن کے داتے ۔ زندگی بخشنے والے
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا میری زندگی ملاپ بکش عنایت کیجیئے ۔ آنکھ جھپکنے کے لئے بھی دل سے نہ بھوے تیرے پریمیوں عاشقوں کے لئے یہی مکمل خیرات ہے ۔ اے میرے پیارے میری گمرایہ دور کر میری حفاظت کیجیئے تو دلی راز جاننے وال اے اور نہایت دانشمند ہے میرے اوپر آب حیات بھری نگاہ شفقت رکھ جس سے زندگی روحآی واخلاقی ہوجاتی ہے ۔ میرے لئے تیرا نام سچ وحقیقت ہی کروڑون بادشاہت اور حکمرانیاں ہے (1) اے نانک ۔ ہر وقت تیری حمدوچناہ کرو ں زباں سے اور کانوں کو تکسین ملے ۔ اے زندگیاں عنایت کرنے والے داتا ر تیری پشت پناہ ہے میں آپ پر قربان ہوں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
پ٘ربھتیرےپگکیِدھوُرِ॥
دیِن دئِیال پ٘ریِتممنموہنکرِکِرپامیریِلوچاپوُرِ॥ رہاءُ ॥
دہ دِس رۄِرہِیاجسُتُمراانّترجامیِسداہجوُرِ॥
جو تُمرا جسُ گاۄہِکرتےسےجنکبہُنمرتےجھوُرِ॥੧॥
دھنّدھ بنّدھ بِنسے مائِیا کے سادھوُ سنّگتِ مِٹے بِسوُر ॥
سُکھ سنّپتِ بھوگ اِسُ جیِء کے بِنُ ہرِ نانک جانے کوُر ॥੨॥੪॥੨੩॥
لفظی معنی :
پگ ۔ پاؤں۔ دہور۔ خاک۔ دین دیال۔ غریب پرور۔ منموہن۔ دل کو اپنی محبت کی گرفت میں لینے والے ۔ لوچا۔ خواہش ۔ تمنا۔ رہاؤ۔ دیہہ دس۔ دس اطراف۔ جس ۔ شہرت ۔ انرترجامی ۔ راز دلی جاننے والے ۔ حضور ۔ حاضر ۔ جھوڑ۔ پچھتا کر ۔ (1) نرنجن۔ بیداغ۔ پاک۔ کل وکتھ ۔ گناہ ۔جرم۔ دھند ۔ بندھ ۔ غلامی اور مخمسے ۔ الجھنیں۔ دسور۔ تشویش ۔ فکر مندری ۔ سکھ سنپت۔ آرام و اسائش اور جائیدا ۔ سادہو ۔ سنگت ۔ خدا ریسدہ گان کی صحبت۔ کور ۔ کوڑ ۔ جھوٹ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے غریب پررو اے دل لبھانے والے کرم و عنایت فرما میری خواہش پوری کر مجھے اپنے پاؤں کی کا ۔ عنایت فرمایئے ۔ رہاؤ۔ اے راز دل جاننے والے ھاضر ناظر سارے عالم میں تیری پاک شہرت ہے جو تیری حمدوثناہ کرتے ہیں ان کی فکر و تشویش میں کبھی روحانی موت نہیں ہوتی (1) اے نانک۔ دنیاوی دولت کے مخمسے الجھنیں فکر مندی اور تشویش آرام و آسائش اور غلام دؤلتکی روحانی رہبروں و رہنماؤں کی صحبت سے راہ راست پر آجاتے ہیں۔ مگر یہ تمام الہٰی نام سچ وحیقت کے بغیر ان سب کو جھوٹ اور مٹ جانے والا سمجھو۔

ٹوڈیِ مਃ੫॥
مائیِ میرے من کیِ پِیاس ॥
اِکُ کھِنُ رہِ ن سکءُ بِنُ پ٘ریِتمدرسندیکھنکءُدھاریِمنِآس॥ رہاءُ ॥
سِمرءُ نامُ نِرنّجن کرتے من تن تے سبھِ کِلۄِکھناس॥
پوُرن پارب٘رہمسُکھداتےابِناسیِبِملجاکوجاس॥੧॥
سنّت پ٘رسادِمیرےپوُرمنورتھکرِکِرپابھیٹےگُنھتاس॥
ساںتِ سہج سوُکھ منِ اُپجِئو کوٹِ سوُر نانک پرگاس ॥੨॥੫॥੨੪॥
لفظی معنی :
پیاس۔ خواہش ۔ آس۔ اُمید۔ رہاؤ۔ نرنجن۔ بیداگ۔ پاک ۔ کرتے ۔ کرتار۔ کرنے والا۔ کل وکھ ۔ جرم ۔ گناہ۔ دوش۔ پورن پار برہم۔ کامل کمایبی بخشنے والا (خدا) سکھداتے ۔ آرام وآسائش بخشنے والا۔ ابناسی ۔ لافناہ ۔ نا مٹنے والا۔ بمل۔ پاک ۔ جاس۔ جس ۔ صفت۔ (1) ست پرساد۔ سنت کی رحمت سے ۔ منورتھ ۔ مقصد۔ گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ ۔ سانت۔ سکون۔ سہج ۔ ذہنی سکون ۔ اپجییؤ۔ پیدا ہوتا ہے ۔ کوٹ سور۔ کروڑوں سورج ۔ پر گاس۔ روشنی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ماں۔ پیارے کے دیدار کے بغیر ایک پل بھی نہیں رہ سکھتا میرے دل کی یہ امید بنی ہوئی ہے ۔ رہاؤ۔ میرے دل میں یہ میری خواہش ہے ۔ پاک بیداغ الہٰینام کی یادوریاض سے دل وجان کے تمام گناہ عافو ہوجاتے ہیں۔ اس بیداغ پاک ۔ کرتار کامل کامیابیاں بخشش کرنے والے آرام و آسائش عنایت کرنے والے لافناہ کی برکت و عنایت سے (1) اے نانک روحانی رہبر کی رہبر کی رحمت سے میرے تمام مقصد حل ہوگئے ہیں۔ اوصاف کے ترانے خدا سے ملاپ ہوگیا ہے ۔ دل کو زہنی اور روحانی سکون مل گیا ہے ۔ او رذہن کووڑوں سور جوں کی روشنی جتنی روشنی سے پر نور ہوگیا ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ہرِ ہرِ پتِت پاۄن॥
جیِء پ٘رانمانسُکھداتاانّترجامیِمنکوبھاۄن॥ رہاءُ ॥
سُنّدرُ سُگھڑُ چتُرُ سبھ بیتا رِد داس نِۄاسبھگتگُنگاۄن॥
نِرمل روُپ انوُپ سُیامیِ کرم بھوُمِ بیِجن سو کھاۄن॥੧॥
بِسمن بِسم بھۓبِسماداآننبیِئودوُسرلاۄن॥
رسنا سِمرِ سِمرِ جسُ جیِۄا نانک داس سدا بلِ جاۄن॥੨॥੬॥੨੫॥
لفظی معنی :
پتت پاون ۔گمراہوں ۔ بداخلاقو ں کی راہ راست پر لانے والا۔ تاپاک کو پاک بنانے والا۔ جیئہ پران مان ۔ روح یا ذہن اور زندگی کا آصرا ۔ من کو بھانو۔ دل کو پیارا ۔ انتر جامی ۔ اندرونی پوشیدہ راز جاننے والا۔ رہاؤ۔ سندر۔ خوبصورت۔ سگھڑ ۔ خوش اخلاق۔ چمر۔ چالاک۔ بیتا۔ باسمجھ ۔ داشنمند۔ رو داس نواس۔ اپنے خدمتگاروں کے دل میں بسنے والا۔ نرمل روپ۔ پاک شکل وصورت۔ انوپ۔ نرالی ۔ انکوھی ۔ کرم بھوم۔ اعمال کی زمین ۔ بیجن سوکھاون۔ جیسا بوتا ہے ویسا کھاتا ہے (1 ) بسمن بسم بھیئے ۔ بسماد ۔ حیران کن سے حیران ہوئے ۔ آن بہ بیؤ ۔ دوسر کوئی اور۔ لاون ۔ برابر۔ رسنا۔ زبان سمر جس جیوا۔ یاد اور رحمدوثناہ سے روھای واخلاقی زندگی میسئر ہوتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا بدکاروں بد اخلاقوں ا پاکوں کو پاک بنانے وال اہے ۔ روح اور زندگی کے لئے سہارا آرام و اصائش پہنچا نے وال ا دلی راز جاننے والا جو دل ی راز جاننے وال اجو دل سے پیار ہے (1) رہاؤ۔ خدا خوبرو خوش اخلاق باتدبیر دانشمند اپنے پریمیوں پیاروں خدمتگاروں کے دلمیں بسنے وال ااسکے پیارے پریمی عاشق اسکی صفت صلاح کرتے ہیں وہ پاک شکل و سیرت لا مثال آقا ہے اسکا دیا ہوا انسانی زندگی و جسم اعمال بونے کے لئے ایک زمین عنایت کی ہے اس میں جیسے اعمال کے بیچ بوؤ گے ویسا سکا پھل نتیجہ پاؤ گے (1) اے نانک ۔ یہ سمجھ کر نہایت حیرانی ہوتی ہے کہ اس خدا کا اس عالم میں ثانی نہیں بے مثال ہے وہ اسکی زباں سے حمدوثناہ کرنے سے روحانی واکلاقی زندگی میسر ہوتی ہے ۔ اسکے خادم ہمیشہ اس صدقے و قربان ہوتے ہیں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
مائیِ مائِیا چھلُ ॥
ت٘رِنھکیِاگنِمیگھکیِچھائِیاگوبِدبھجنبِنُہڑکا جلُ ॥ رہاءُ ॥
چھوڈِ سِیانپ بہُ چتُرائیِ دُءِ کر جوڑِ سادھ مگِ چلُ ॥
سِمرِ سُیامیِ انّترجامیِ مانُکھ دیہ کا اِہُ اوُتم پھلُ ॥੧॥
بید بکھِیان کرت سادھوُ جن بھاگہیِن سمجھت نہیِ کھلُ ॥
پ٘ریمبھگتِراچے جن نانک ہرِ سِمرنِ دہن بھۓمل॥੨॥੭॥੨੬॥
لفظی معنی :
مائیا چھل۔ دنیاوی دولت ایک دہوکا ہے ۔ ترن کی اگن۔ گھاس یا تینکوں کی آگ۔ میگھ کی چھائیا۔ بادل کا سایہ ۔ ہڑکا جل۔ سیلاب کا پانی ۔ گوبندبھنجن ۔ الہٰی عبادت و بندگی (1) رہاؤ۔ سیانپ ۔ دانشمندی ۔ چترائی ۔ چالاکی دہوکا ۔ دوئے کر جوڑ۔ دست بستہ ۔ دونا ہاتھ باند کر ۔ سادھ مگ ۔ پاکدامنی کے راستہ پر ۔ روحانی رہبروں کے بتائے راستے ۔ چل اختیار کر۔ سمرسوامی ۔ خدا کو یاد کر۔ انتر جامی ۔ جو راز دل جانتا ہے ۔ مانکھ دیہہ۔ انسانی زندگی۔ اتم پھل۔ نہایت اچھا بلند رتبے والا نتیجہ (1) وید وکھیان ۔ ویدوں کی تشریح ۔ کرت سادہوجن۔ پاکدامن روحآنی رہنما کرتے ہیں ۔ بھاگ ہین ۔ بد قسمت ۔ کھل۔ جاہل۔ پریم بھگت راچے ۔ الہیی پریم پیار میں محو ومجذوب ہونے سے ۔ ہر سرمن ۔ الہٰی یاد سے ۔ دہن ۔ بھیئے مل ۔ ناپاکیزگی جل جاتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ماں ۔ دنیاوی دولت ایک دہوکا ہے ۔ الہٰی بندگی و عبادت کے بغیر گھاس اور تنکوں کی آگ بادلوں کا سایہ اور سیلاب کا پانی کی مانند ہے (1) رہاؤ۔
دانشمند یاں اور دہوکا بازی چھوڑ کر دست بستہ ہوکر روحانی رہنماؤں کے بتائیا ہوا راہ راست اختیار کر کے راز دلی جاننے والے الہٰی نام سچ وحقیقت کا کاربندھ ہوکر چل انسانی زندگی کا یہی نیک بخت اور اچھا نتیجہ ہے (1) خدا رسیدہ روحانی رہنما روحانی زندگی بسر کرنے کے لئے نصیحتیں نہیں ہیں۔ اے نانک۔ خدائی خدمتگار الہٰی عشق و محبت میں محو ومجذوب رہتے ہیں۔ لہذا الہٰی یاد کی برکت سے ناپاکیزگی جل جاتی ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
مائیِ چرن گُر میِٹھے ॥
ۄڈےَبھاگِدیۄےَپرمیسرُکوٹِپھلادرسنگُرڈیِٹھے॥ رہاءُ ॥
گُن گاۄتاچُتابِناسیِکامک٘رودھبِنسےمدڈھیِٹھے॥
استھِر بھۓساچرنّگِراتےجنممرنباہُرِنہیِپیِٹھے॥੧॥
بِنُ ہرِ بھجن رنّگ رس جیتے سنّت دئِیال جانے سبھِ جھوُٹھے ॥
نام رتنُ پائِئو جن نانک نام بِہوُن چلے سبھِ موُٹھے ॥੨॥੮॥੨੭॥
لفظی معنی :
چرن گر میٹھے ۔ پائے مرشد پیارے ہیں۔ وڈے بھاگ۔ بلند قسمت سے ۔ درسن گر ڈیٹھے ۔ دیدار مرشد سے ۔ رہاؤ۔ اچت ابناسی ۔ قائم دائم ۔ لافناہ ۔ کام۔شہوت ۔ کرودھ ۔ غصہ ۔ مد ڈیھٹھے ۔ مد ہوش بےحیات۔ استھر۔ مستقل ۔ ساچ رنگ راتے ۔ سچے خدا کے پریم میں محو ومجذوب۔ جنم مرن۔ تناسخ۔ بہور ۔ دوبارہ ۔ پیٹھے ۔ پیتے ۔ مراد عذآب برداشت نہیں کرنا پڑتا (1) ہر بھجن۔ الہٰی بندگی ۔ رنگ رس۔ عیش و عشرت ۔ نام رتن ۔ قیمتی نام سچ وحقیقت۔ دہوں ۔ خالی ۔ بغیر ۔ موٹھے ۔ لٹ گئے ۔ دہوکا کھا گئے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ماں مجھے پائے مرشد سے پیار ہے ۔ بلند قسمت خدا عنایت کرتا ہے دیدار مرشد سے کروڑوں فائدے حاصل ہوتے ہیں ۔ رہاؤ۔ اے ماں۔ صدیوی مستقل مزاج لافناہ خدا کی حمدوثناہ کرنے سے بار بار ذہن دل و دماغ پر حملے کرنے والے احساسات بد خٹم ہوجاتے ہیں مٹ جاتے ہیں۔ صڈیوی قائمد ائم خدا کے پیار ومحبت میں محو ومجذوب مستقل مزاج ہو جاتے ہیں ڈگمگاتے نہیں اور دوبارہ تناسخ کا عذآب برداشت نہیں کرنا پڑتا (1) روحانی رہنما و رہبر کی کرم و عنایت سے جتتنی دنیاوی محبت عیش و عشرت بغیر الہٰی حمدوثناہ صفت صلاح کی سب جھوٹے جانے جاتے ہیں۔ اے نانکبتادے کہ خادمان خدا الہٰی نام سچ وحقیقت پاتے ہیں اور نام کے بغیرے سارے قیمتی زندگی لٹاجاتے ہیں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
سادھسنّگِ ہرِ ہرِ نامُ چِتارا ॥
سہجِ اننّدُ ہوۄےَدِنُراتیِانّکُرُبھلوہمارا॥ رہاءُ ॥
گُرُ پوُرا بھیٹِئو بڈبھاگیِ جا کو انّتُ ن پاراۄارا॥
کرُ گہِ کاڈھِ لیِئو جنُ اپُنا بِکھُ ساگر سنّسارا ॥੧॥
جنم مرن کاٹے گُر بچنیِ بہُڑِ ن سنّکٹ دُیارا ॥
نانک سرنِ گہیِ سُیامیِ کیِ پُنہ پُنہ نمسکارا ॥੨॥੯॥੨੮॥
لفظی معنی :
صحبت پکدامن روحانی رہنما جس نے راہ راست پالیا ہے (الہٰی ) خدا یاد آتا ہے ۔ چتارا۔ یاد آتا ہے ۔ سہج انند۔ ذہنی یا روحانی خوشی۔ انکر ۔ بیج میں سے نکلی پہلی کوپنل یا پھوٹ ۔ رہاؤ۔ بھیٹیو ۔ ملاپ ہوا۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت سے ۔ کر گیہہ۔ ہاتھ پکڑ کر ۔ دکھ ساگر سنسار۔ دنیاوی زندگی کے زہریلے سمندر سے (1) گربجنی ۔ کلام مرشد سے ۔بہوڑ ۔ دوبارہ۔ سنکٹ ۔ مصیبت۔ دوآر۔ دروازہ ۔ در۔ سرن گہی ۔ پشت ۔ پناہ لی ۔ پنیہہ۔ پنیہہ۔ بار بار۔ نمسکار ۔ سر جھکاتا ہوں۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو شحض روحانی رہبر پاکدامن انسان جس نے زندگی کے راہ راست کو اپنالیا ہو کی صحبت میں الہٰی نام سے سچ وحقیقت کی یادوریاض کی ہو اسے تب دروز روحانی و ہنی سکون حاصل ہوتا ہے اور اسکے پہلے کی ہوئی نیکیاں اور نیک اعمال ظہور پذیر ہوتے ہیں۔ر ہاؤ۔
جس نے بلند قسمت سے کامل مرشد کا وصل و ملاپ حاصل ہو جائے ۔ وہ پانے خادم کو اس دنیاوی زندگی کے زہریلے سمندر سے جسکا کوئی شمار اور کنارہ نہیں ہاتھ پکڑ کر نکال بستا ہے (1) کلام مرشد سے اسکا تناسخ ختم ہوجاتا ہے اور مصیبتوں کا ساہمنا نہیں کرنا پڑتا۔ اے نانک۔ آقائے عالم کی پشت پناہی حاصل کی ہے ۔ لہذا بار بار سر جھکا تاہوں اور اداب بجا لاتا ہوں۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
مائیِ میرے من کو سُکھُ ॥
کوٹِ اننّد راج سُکھُ بھُگۄےَہرِسِمرتبِنسےَسبھدُکھُ॥੧॥ رہاءُ ॥
کوٹِ جنم کے کِلبِکھ ناسہِ سِمرت پاۄنتنمنسُکھ॥
دیکھِ سروُپُ پوُرنُ بھئیِ آسا درسنُ بھیٹت اُتریِ بھُکھ ॥੧॥
چارِ پدارتھ اسٹ مہا سِدھِ کامدھینُ پارجات ہرِ ہرِ رُکھُ ॥
نانک سرنِ گہیِ سُکھ ساگر جنم مرن پھِرِ گربھ ن دھُکھُ ॥੨॥੧੦॥੨੯॥
لفظی معنی :
دنسے ۔ مٹے ۔ کوٹ انند۔ کروڑوں خوشیاں۔ راج سکھ ۔ حکمرانی کے مزے ۔ رہاؤ۔ کل وکھ ۔ گناہ۔ جرم۔ پاون ۔ پاک ۔ ملتے ہیں۔ تن من ۔ دل وجان۔ سروپ ۔شکل ۔ پورن بھئی آسا۔ امیدیں پوری ہوئیں۔ درسن بھیٹ ۔ دیدار و ملاپ سے ۔ اتری بھکھ ۔ خواہش باقتی نہ رہی (1) چار پدارتھ ۔ دھرم۔ ارتھ ۔ کام ۔ موکھ ۔ مراد مذہبی فرائض کی انجام دہی ۔ سرمایہ۔ روزگار اورنجات اور کامیابی ۔ مراد روز مرہ کے مذہبی یا ذہنی فرائض ۔ نجات یا آزادی ۔ کام یا کامیابی ۔ دنیاوی ضرورتوں کو پوری کرنا ۔ اسٹ مہاسدھ ۔ آٹح بھاری کراماتیں۔ کام دھن ۔ بہشتی گائے ۔ جس میں انسان کی خواہشات پوری کرنے کی توفیق ہے ۔ پار جات ۔ بہشتی درخت۔ جو سب کی دلی خواہشات پوری کرتا ہے ۔ سرن گہی ۔ سکھ ساگر۔ آرام و آسائش کے سمندر کی پشت پناہی حاصل کی ۔ جنم مرن ۔ تناسخ ۔ گربھ ۔ غرور۔ ڈھکھ ۔ فکر تشویش
ترجمہ معہ تشریح:
اے ماں میرے دل کو اتنا سکون محسوس ہوتا ہے ۔ کہ میں کروروں بادشاہوں حکمرانیاں کا لطف اور خوشیاں ذہنی و روحانی پا رہا ہوں ۔ الہٰی ریاض و عبادت و بندگی سے تمام مصیبتیں عذاب و تکلیفات دو ہوجاتی ہے ۔ رہاؤ۔ الہٰی یاد سے ذہنی و جسمانی پاکیزگی حاصل ہوتی ہے ۔ اور دیرینہ کئے ہوئے گناہوں کا ازالہ ہو جاتا ہے ۔ دیدار سے مرادیں اور خواہشات پوری ہوتیں ہیں اور کوئی خواہشات باقتی نہیں رہتی (1) چاروں نعمتیں اور آٹھوں کراماتی طاقتیں کام دھین بہشتی گائے ار پارجات بہشتی شجر خدا خود ہی ہے ۔ اے نانک۔ اس آرام و آسائش کےس سمندر کی پشت پناہی سے تناسخ کا چکر کی تشویش اور فکر مندی ختم ہوجاتی ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੫॥
ہرِ ہرِ چرن رِدےَ اُر دھارے ॥
سِمرِ سُیامیِ ستِگُرُ اپُنا کارج سپھل ہمارے ॥੧॥ رہاءُ ॥
پُنّن دان پوُجا پرمیسرُ ہرِ کیِرتِ تتُ بیِچارے ॥
گُن گاۄتاتُلسُکھُپائِیاٹھاکُراگماپارے॥੧॥
جو جن پارب٘رہمِ اپنے کیِنے تِن کا باہُرِ کچھُ ن بیِچارے ॥
نام رتنُ سُنِ جپِ جپِ جیِۄاہرِنانککنّٹھمجھارے॥੨॥੧੧॥੩੦॥
لفظی معنی :
ردتے ۔ دل میں بسائے ۔ سپھ۔ برآور۔ کامیاب ۔ر ہاؤ۔ پن۔ ثواب۔ دان۔ خیرات۔ ہر کیرت۔ الہٰی صفت صلاح۔ تت۔ حقیقت۔ پوجا۔ پرستش۔ بچارے ۔س مجھے ۔ اتل۔ بے بہا ۔ جن کا اندازہ نہ کیا جا سکے ۔ اگم ۔ ایسا جس تک انسانی عقل و ہوش کی رسائی نہ ہو سکے ۔ اپارے ۔ اتنا وسیع کہ اسکا کنار ا معلوم نہ کیا جا سکے (1) جو جن۔ جس خدمتگار کو ۔ پار برہم۔ کامیابی بخشنے ولاے ۔ اپنے کینے ۔ اپنا لیا۔ تن کا ۔ ان کا ۔ بہور۔ دوبارہ ۔ نام رتن ۔ قیمتی ہیرے جیسانام سچ وحقیقت۔ گنٹح مجھارے ۔ گلے میں پرؤلیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان خدا دل میں بسا۔ اپنے مرشد اور خدا کی یاد سے تمام کام سنور جاتے ہیں پایہ تکمیل تک پہنچ جاتے ہیں (1) رہاؤ ۔ تمام سوچ وچارروں سے یہ نتیجہ اخذ ہوتا ہے کہ الہٰی عبادت و ریاضت اور حمدوثناہ ہی الہٰی پرستش ثواب و خیرات ہے انسانی عقل و ہوش سے بلند و بالا کی حمدوثناہ سے بیشمار آڑام و آسائش حاصل ہوتے ہیں (1) جنہیں خدا نے اپنا لیا ان کے اعمال کے حسابات پر غور نہیں کرتا۔ اے نانک الہٰی نام اعمال کے حسابات پر غور نہیں کرتا ۔ اے نانک۔ الہٰی نام جو سچ وحقیقت ہے سنکر اور ریاض سےز ندگی ملتی ہے ۔ روحانیت حاصل ہوتی ہے اب میں نے اسے اپنے گلے کی تسبیح بنا لی ہے ۔

ٹوڈیِ مہلا ੯
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
کہءُ کہا اپنیِ ادھمائیِ ॥
اُرجھِئو کنک کامنیِ کے رس نہ کیِرتِ پ٘ربھگائیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
جگ جھوُٹھے کءُ ساچُ جانِ کےَ تا سِءُ رُچ اُپجائیِ ॥
دیِن بنّدھ سِمرِئو نہیِ کبہوُ ہوت جُ سنّگِ سہائیِ ॥੧॥
مگن رہِئو مائِیا مےَ نِس دِنِ چھُٹیِ ن من کیِ کائیِ ॥
کہِ نانک اب ناہِ انت گتِ بِنُ ہرِ کیِ سرنائیِ ॥੨॥੧॥੩੧॥
لفظی معنی :
ادھمائی ۔ کمنگی ۔ کنک۔ سونا۔ کامنی ۔ عورت۔ رس۔ لطف۔ مزے ۔ کیرت پربھ ۔ الہٰی حمدوثناہ (1) رہاؤ۔ رچ۔ محبت۔ اپجائی ۔ پیدا کی ۔ دین بندھن۔ غریب پرور۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ سہائی ۔ مددگار (1) مگن ۔ محو۔ نس دن۔ شب و روز ۔ کائی ۔ غلاظت۔ ناپاکیزگی ۔ اب ناہے انت گت۔ اب کیتی ۔ طرح حالت درست نہیں ہو سکتی ۔ بن ہر کی سرنائی ۔ الہٰی پشت پناہی کے بغیر۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں میں اپنی کتنی روحانی واخلاقی گراوٹ کہوں میں ہمیشہ عورت اور زرو دولت کی لذتوں میں ہی مصروف رہا کبھی خدا کی حمدوثناہ نہیں کی (1) رہاؤ۔ اس ختم ہو جانے والے علام کو صدیوی قائمد ائم سمجھ کر اسکی محبت میں محو ومجذوب رہا۔ غریب پرور کو کبھی یاد نہیں کیا جو ہمیشہ ۔ ساتھی اور مددگار رہتا ہے اور ہوتا ہے ۔ دنیاوی دولت میں محو ومجذوب رہا دل کی برائیاں بدیاں اور ناپاکیزگی و غلاظت دور نہ ہوئی ۔ اے نانک بتادے کہ الہٰی پشت و پناہی کے بغیر بلند روحانی و اخلاقی بلندی حاصل نہیں ہو سکتی ۔

ٹوڈیِ بانھیِ بھگتاں کیِ
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
کوئیِ بولےَ نِرۄاکوئیِبولےَدوُرِ॥
جل کیِ ماچھُلیِ چرےَ کھجوُرِ ॥੧॥
کاںءِ رے بکبادُ لائِئو ॥
جِنِ ہرِ پائِئو تِنہِ چھپائِئو ॥੧॥ رہاءُ ॥
پنّڈِتُ ہوءِ کےَ بیدُ بکھانےَ ॥
موُرکھُ نامدیءُ رامہِ جانےَ ॥੨॥੧॥
لفظی معنی :
نروا۔ نزدیک ۔ چرے ۔ چڑھتی ہے ۔ کھجور۔ مراد۔ بلندی پر (1) کانیئے ۔ کیوں ۔ بکباد۔ فصول جھگڑا۔ پائیو ۔ پالیا۔ چھپایؤ۔ چھپاتا ہے ۔ پوشیدہ رکھتا ہے (1) رہاؤ۔ وید وکھانے ۔ ویدوں کو تشریح و تفصیل سے سناتا ہے ۔ رامیہہ جانے ۔ خدا کی پہچان ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کوئی خدا کو نزدیک بتاتا ہے او ر کوئی دور کہتا ہے ۔ اسکا فیصلہ ایسا ناممکن جیسے پانی میں رہنے والی مچھلی کھجور پر چرھنے کی کوشش کرے (1) کیوں بحث مباحثے میں پڑتے ہو جا پاتا ہے وہ چھپاتا ہے ۔ رہاؤ۔ پنڈت یا مولوی عالم فاضل ہوکر مذہبی کتابوں کی تشریحات و تفصیلات بتاتے ہیںا ور بحثت مباحثے کرتے ہین ۔ مگر نادان نامدیو کو صرف خدا کی ہی پہچان ہے ۔

کئُن کو کلنّکُ رہِئو رام نامُ لیت ہیِ ॥
پتِت پۄِتبھۓرامُکہتہیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
رام سنّگِ نامدیۄجنکءُپ٘رتگِیا آئیِ ॥
ایکادسیِ ب٘رتُرہےَکاہےکءُتیِرتھجائیِ ॥੧॥
بھنتِ نامدیءُ سُک٘رِتسُمتِبھۓ॥
گُرمتِ رامُ کہِ کو کو ن بیَکُنّٹھِ گۓ॥੨॥੨॥
لفظی معنی :
گؤن کو۔ کس کا ۔ کلنک ۔ دھبہ ۔ داغ۔ رہیؤ ۔ پتت۔ ناپاک ۔ بد اخلاق ۔ بد چلن۔ پوت۔ پاک ۔ نیک ۔ چلن ۔ پوتر۔ (1) رہاؤ۔ رام ۔ خدا۔ سنگ۔ ساتھ ۔ صحبت۔ نامدیو جن۔ خدمتگار نامدیو۔ پر گتیا۔ یقین واثق۔ رہے ۔ چھوڑ دیا۔ کاہے کو ۔ کیوں ۔ ترتھ ۔ زیارت گاہ (1) بھنت۔ عرض گذارتا ہے ۔ سکرت ۔ نیک اعملا ۔ نیک کمائی ۔ سمت۔ اچھی سمجھ ۔ اچے خیال۔ گرمت۔ سبق مرشد۔ بیکنٹھ ۔ بہشت ۔ جنت۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو نام خدا کا لیتا ہے داغ اور دھبے زندگی اور چلن یہ لگے سب دھل جاتے ہیں مٹ جاتے ہیں ۔ نام خدا کا لینے سے نا پاک اور بد چلن بھی پا ک ہو جاتے ہیں نیک چلن بن جاتے ہیں۔ رہاؤ۔ الہٰی حمدوثناہ و خدمت وپشت پناہی و صحبت سے نامدیوں کو یقین واثق ہوا کہ نہ ضرورت ہی زیارت گاہ کی زیارت کی نہ پرہیز گاری کی (1)
نامدیوں عرض گذارتا ہے ۔ نیک کارواعمال اور اچھے نیک خیال ہوجاتے ہیں سبق و نصائح مرشد سے سب کو جنت نصیب ہوتی ہے ۔

تیِنِ چھنّدے کھیلُ آچھےَ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کُنّبھار کے گھر ہاںڈیِ آچھےَ راجا کے گھر ساںڈیِ گو ॥
بامن کے گھر راںڈیِ آچھےَ راںڈیِ ساںڈیِ ہاںڈیِ گو ॥੧॥
بانھیِۓکےگھرہیِݩگُآچھےَبھیَسرماتھےَسیِݩگُگو॥
دیۄلمدھےلیِگُآچھےَلیِگُسیِگُہیِگُگو॥੨॥
تیلیِ کےَ گھر تیلُ آچھےَ جنّگل مدھے بیل گو ॥
مالیِ کے گھر کیل آچھےَ کیل بیل تیل گو ॥੩॥
سنّتاں مدھے گوبِنّدُ آچھےَ گوکل مدھے سِیام گو ॥
نامے مدھے رامُ آچھےَ رام سِیام گوبِنّد گو ॥੪॥੩॥
لفظی معنی :
تین چھدنے کھیل۔ یہ عاللم تین باتوں پر مشتمل ایک کھیل ہے (1) رہاؤ۔ ہانڈی ۔ پکوان پکانے کا برتن۔ راجہ سانڈی ۔ ساندھنی ۔ اور بر ہمن کے گھر۔ بیوہ عورت (1) نیئے کی دکان میں۔ ہنگ ۔ سنتان مدھے ۔ روحا رہنماؤں خدا رسیدہ گان کے پاس ۔ گوبند۔ خدا ۔ گوکلمدھے ۔ سیام ۔ گوکل میں کرشن ۔ نامے مدھے نامے پاس۔ رام ۔ خدا۔ اللہ ۔ رب
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے گرنتھ صاحب میں کبیر جی فمراتے ہیں۔
لوگ جانے ایہہ گیت ہے ۔ ایہہ تو برہم وچار۔ مراد خدا کو سمجھنا اور سوچنا اور حقیقت اور سچ کی پہچان کرنا ہے الہٰی نام کو سمجھنا ہے ۔ رہاؤ۔ کا مطلب ٹھہراؤ۔ پھل ستاب۔ اس مین سارے کلام کا نتیجہ نجچوڑ۔ منحصر مدعا۔ باقی سارا کلام کی تشریح جیسے کھلے ہئوے پھول کے درمیان اسکے بیج یا خوشبو کا درماین ۔ لہذا اس کلام میں تینوں جملوں کا کھیل کی شکل ہے سارا کلما الہٰی سوچ وچار ہے ۔ کھیل سے مراد یہ علام ایک کھیل جو تین جملوں پر مشتمل ہے ۔ چھند کے سنسکرت مین مطلب عادت یسا سبھاؤ بتائیا ہے ۔ لہذا تین چھندے کھیل کا مطلب ہے ۔ یہ عالم تین عادتوں پر مشتمل کھیل ہے مراد تیں وصفوں پر مشتمل ایک عالمی تماشا ہے ۔ سارے تینوں وصفوں پر مشتل جاندار اپنی اپنی ععادات کی مطابق اسمیں بسر اوقات کر رہے ہیں۔ لہذا اسے خیال کی تشریح باقی کلام ہے ۔ راجاؤ ں کے گھر سانڈی وغیرہ بادشاہوں کا سامان ہے گھماو تیلی او بیئے کے گھر میٹی کے برتن ۔ تیل اور ہینگ وغیرہ وغیرہ اشیا کے کاروبار رچل رہے ہیں اور پنڈت اپنی مذہبی کتابوں کے پڑھنے پڑھانے میں مشغول ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ عالم تین وصفوں پر مشتمل الہٰی کھیل ہے ۔ رہاؤ۔ گھمار کے گھر ہانڈی ملتی ہے راجے کے گھر سانڈھی برہمن کے گھر رنڈی ۔ بیوی یا بدھو ۔ لہذا ان کے گھروں میں رانڈی ۔ سانڈھی اور ہانڈی مشہور ایشا ہیں (1) ۔ بنیئے کی دکان میں ہینگ ۔ بھینسوں کی پیشانی پر سنگ ۔ اور شوجی کے مدنر میں لنگ اچھا لگتا ہے (2) تیلی ے گھر میں تیل ۔ جنگل میں سبزہ زار اورمالی کے گھر کیلا لہذا تیونں جگہوں پر تیل ، سبزہ اار اور کیلا مہشور اشیا ہیں (3) جیسے گوکل میں کرشن۔ اس طرح سے خدا رسیدہ روحانی رہنماؤں کے دل میں خدا بستا ہے ۔ اسطرح سے نامدیوں دلمیں خدا بستا ہے ۔ اس لئے یہ سارے اپنی اپنی جگہ بس رہے ہوتے ہیں۔

راگُ بیَراڑیِ مہلا ੪ گھرُ ੧ دُپدے
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
سُنِ من اکتھ کتھا ہرِ نام ॥
رِدھِ بُدھِ سِدھِ سُکھ پاۄہِبھجُگُرمتِہرِرامرام॥੧॥ رہاءُ ॥
نانا کھِیان پُران جسُ اوُتم کھٹ درسن گاۄہِرام॥
سنّکر ک٘روڑِتیتیِسدھِیائِئو نہیِ جانِئو ہرِ مرمام ॥੧॥
سُرِ نر گنھ گنّدھ٘ربجسُگاۄہِسبھگاۄتجیتاُپام॥
نانک ک٘رِپاکریِہرِجِنکءُتےسنّتبھلے ہرِ رام ॥੨॥੧॥
لفظی معنی :
اکتھ گھتا۔ نا قالب بیان بیان ۔ ہر نام۔ الہٰی نام۔ ردھ ۔ دنیاوی دولت اور نعمتیں ۔ بدھ ۔ عقل و ہوش۔ سدھ ۔کراماتی قوتیں ۔ بھج ۔ یاد کر ۔ گرمت۔ سبق مرشد (1) رہاؤ۔ نانا ۔ کئی قسم کے ۔ کھیان ۔ قصے کہانیاں۔ جس اتم۔ بلند رجہ ۔ حمدوثناہ ۔ کھٹ درسن۔ چھ شاشتر ۔ گاویہہ رام۔ حمدوخد کی کرتے ہیں۔ سنکہ ۔ شوجی ۔ مرمام ۔ بھید ۔ر از (1) سر ۔ فرشتوں کے ۔ جیت اپام ۔ جتتے پیدا ہوئے ہیں۔ مراد کل عالم ۔ جن کؤ۔ جن پراتے ۔ وہ سنت ۔ بھلے ۔وہی ۔ نیک انسان اور روحانی رہنما ہیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل اس ناقابل بیان جو بیان سے بعید ہے الہٰی نام سچ و حقیقت صدیوی سچ سن اے دل سبق مرشد پر عمل پیرا ہوکر خدا کی بندگی اطاعت و یادوریاض کر ۔ تاکہ دنیاوی دولت اور نعمتیں بلند ہوش و عقل کراماتی قوتیں اور ہر طرح کے آرام و آسائش حاصل کرے (1) رہاؤ۔ کئی قسم کے قصے و کہانیاں بلند حمدوچناہ پرانوں ھچھ شاشتروں بھی حمد کرتے ہیں شوجی اور تیتس کروڑو دیونا بھی اور کل عالم اسمیںد ھیان لگاتے ہیں مگر حقیقت ار راز نہیں سمجھ سکے (1) فرشتے ۔ انسان فرشتوں کے خدمتگار ار فرشتوں کے سنگیتن کا غرض یہ کہ سارا علام جو بھی پیدا ہو اہے حمدوچناہ کرتا ہے ۔ مگر اے نانک۔ جس پر ہے رحمت خدا کی وہی ہیں خدا رسیدہ پاکدامن روحآنی رہنما نیک سنت ۔

بیَراڑیِ مہلا ੪॥
من مِلِ سنّت جنا جسُ گائِئو ॥
ہرِ ہرِ رتنُ رتنُ ہرِ نیِکو گُرِ ستِگُرِ دانُ دِۄائِئو॥੧॥ رہاءُ ॥
تِسُ جن کءُ منُ تنُ سبھُ دیۄءُجِنِہرِہرِنامُسُنائِئو॥
دھنُ مائِیا سنّپےَ تِسُ دیۄءُجِنِہرِمیِتُمِلائِئو॥੧॥
کھِنُ کِنّچِت ک٘رِپا کریِ جگدیِسرِ تب ہرِ ہرِ ہرِ جسُ دھِیائِئو ॥
جن نانک کءُ ہرِ بھیٹے سُیامیِ دُکھُ ہئُمےَ روگُ گۄائِئو॥੨॥੨॥
لفظی معنی :
سنت جنا۔ خدمتگاران سچا مرشد۔ دان۔ خیرات۔ (1) رہاؤ۔ تس جن کو ۔ اس خدمتگار کو۔ ہر ہر نام سنا ہوا۔ الہٰی نام سنائیا ۔ سنپے ۔ سنپتی ۔ جائیداد۔ میت ۔ دوت۔ کھن۔ تھوڑے سے وقفے کے لئے ۔ کچت ۔ تھوڑی سی ۔ جگدیسر ۔ مالک ۔ علام ۔ دھیایؤ۔ توجہ دی ۔ بھیٹے ۔ ملاپ ۔ دکھ ۔ عذاب۔ ہونمے ۔ خودی
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے سچے مرشد نے بطور خیرات الہٰی نام کا قیمتی تحفہ ہیرا دلا دیا اے دل اس نے روحانی پاکدامن خدا رسیدہ رہنماؤں سے مل کر الہٰی حمدوثناہ کرنے لگا (1) رہاؤ۔ اے دل اسے اپنا دل وجان اور سب کچھ بھینٹ کرؤ جو الہٰی نام سناتا ہے ۔ ۔ دولت جائیداد اسے بھیٹ چڑھاؤ جو دست خدا سے ملاپ کرتا ہے (1) اے دل جب بھی مال عالم نے اپنے کسی خدمتگار پر تھوڑے سے وقفے کے لئے تھوڑی سی کرم و عنایت فمرائی تو اس نے حمدوثناہ خدا کی کی ۔ جسے وصل الہٰی نصیب ہوا اے نانک۔ عذاب مٹا خودی گئی ۔

بیَراڑیِ مہلا ੪॥
ہرِ جنُ رام نام گُن گاۄےَ॥
جے کوئیِ نِنّد کرے ہرِ جن کیِ اپُنا گُنُ ن گۄاۄےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
جو کِچھُ کرے سُ آپے سُیامیِ ہرِ آپے کار کماۄےَ॥
ہرِ آپے ہیِ متِ دیۄےَسُیامیِہرِآپےبولِبُلاۄےَ॥੧॥
ہرِ آپے پنّچ تتُ بِستھارا ۄِچِدھاتوُپنّچآپِپاۄےَ॥
جن نانک ستِگُرُ میلے آپے ہرِ آپے جھگرُ چُکاۄےَ॥੨॥੩॥
لفظی معنی :
رام نام۔ الہٰی نام۔ نند۔ بد گوئی ۔ ہرجن۔ الہٰی خدمتگار۔ گن ۔ وصف۔ نہ گواوئے۔ ضائع نہ کرے (1) رہاؤ۔ ہر آپے بول بلاوے ۔ خدا خود ہی بولتا اور بلاتا ہے ۔ مراد خدا ہی اپنے خدمتگار کے ذریعے بولتا اور بلاتا ہے ۔ پنچ تت۔ (پانچ مادے ) پانی ۔ آگ۔ زمین ۔ ہوا اور آسمان ۔۔ خلا۔ پانچ دھاتیں۔ پانی میں لطف۔ آگ میں شکلیں۔ زمین میں۔ بو۔ ہوا میں ۔ میل۔ خلایا آسمان میں آواز ۔ جھگر۔ کشمکش ۔ مکاوے ۔ ختم کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی عاشق ہمیشہ الہٰی حمدوثناہ کرتا ہے اور اگر کوئی اسکی بد گوئی کرتا ہے تب بھی وہ اپنی عادت اور وصف ضائع نہیں کرتا ۔ رہاؤ۔ جو کچھ ہوتا ہے خدا خؤد کرتا اور کراتا ہے اور خود ہی عقل و شعور عنایت کرتا ہے ۔ خودی ہی بولتا اور اور بلاتا ہے (1) خود ہی پانچ بنیادوی حقیقتوں کا پھیلاؤ ہے ۔ اور اس میں خؤد ہی ان میں پانچ مادایات ڈال رکھے ہیں۔ اے نانک۔ خدا اپنے خدمتگاروں کو خؤد ہی وصل عنایت کرتاہے ۔ خؤد ہی کشمکش مٹاتا ہے ۔

بیَراڑیِ مہلا ੪॥
جپِ من رام نامُ نِستارا ॥
کوٹ کوٹنّتر کے پاپ سبھِ کھوۄےَہرِبھۄجلُپارِاُتارا॥੧॥ رہاءُ ॥
کائِیا نگرِ بست ہرِ سُیامیِ ہرِ نِربھءُ نِرۄیَرُ نِرنّکارا ॥
ہرِ نِکٹِ بست کچھُ ندرِ ن آۄےَہرِلادھاگُرۄیِچارا॥੧॥
ہرِ آپے ساہُ سراپھُ رتنُ ہیِرا ہرِ آپِ کیِیا پاسارا ॥
نانک جِسُ ک٘رِپاکرےسُہرِنامُۄِہاجھےسوساہُسچاۄنھجارا॥੨॥੪॥
لفظی معنی :
نستارا۔ کمایابی ۔ کوٹ کٹنتر۔ کروڑوں گناہ۔ پاپ۔ جرم۔ کھودے ۔ مٹادیتا ہے ۔ بھوجل پار اتار۔ زندگی کے خوفناک سمندر سے عبور (1) رہاؤ۔ کائیا ۔ جسم ۔ نگر ۔ شہر۔ نربھؤ۔ بیخوف۔ نرنکار۔ بلا آکار۔ بلا حجم۔ بلا جسم۔ نرویر ۔ بلا دشمن۔ نکٹ ۔نزدیک۔ وست۔ بستا ہے ۔ ندر آوے ۔ نظر نہیں اتا ۔ لادبھا گرویچار۔ سبق مرشد سے ملتا ہے (1) ساہو۔ شاہوکار ۔ صراف۔ سونے کا سوداگر۔ پسار۔ پھیلاو ۔ وہاجھے ۔ خریدتا ہے ۔ سچا ونجارا۔ سچا سوداگر خریدار۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل خدا کو یاد کیا کر اسی میں کامیابی ہے ۔ بیشار کروڑوں کی تعداد میں گہاوں اور جرموں کو مٹا دیتا ہے اور اس خوفناک زندگی میں کامیاب بناتا ہے (1) رہاؤ۔ خدا اس جسم میں جو ایک شہر کی مانند ہے بستا ہے وہ بیخوف ۔ بلا دشمن بلا آکار حجم ہے ۔ خدا ہمیشہ ساتھ اور نزدیک بستا ہے مگر نظر نہیں آتا۔ سبق مرشد سے وصل نصیب ہوتا ہے (1) خدا خود ہی قیمتی ہیرا خدو ہی شاہوکار خود ہی جانچ کرنے والا صراف اور خود اس علام کا پھیلاؤ کرنے والا ہے اے نانک جس پر خدا کرم فرمائی کرتا ہے ہو الہٰی نام حق سچ و حقیقت خرید کرتا ہے وہی شاہوکار صراف وہی صدیوی سوداگر ہے ۔

بیَراڑیِ مہلا ੪॥
جپِ من ہرِ نِرنّجنُ نِرنّکارا ॥
سدا سدا ہرِ دھِیائیِئےَ سُکھداتا جا کا انّتُ ن پاراۄارا॥੧॥ رہاءُ ॥
اگنِ کُنّٹ مہِ اُردھ لِۄلاگاہرِراکھےَاُدرمنّجھارا॥
سو ایَسا ہرِ سیۄہُمیرےمنہرِ انّتِ چھڈاۄنھہارا॥੧॥
جا کےَ ہِردےَ بسِیا میرا ہرِ ہرِ تِسُ جن کءُ کرہُ نمسکارا ॥
ہرِ کِرپا تے پائیِئےَ ہرِ جپُ نانک نامُ ادھارا ॥੨॥੫॥
لفظی معنی :
نرنجن۔ بیداغ پاک ۔ نرنکارا۔ جسکا کوئی وجود یا جسم وکار نہیں۔ سکھداتا۔ آرام و آسائش پہنچانے والا۔ انت۔ آکر۔ پارادار۔ کنار ا (1) رہاؤ۔ اگن کنڈ۔ آگ کا تالاب مراد ماں کے پیٹ ۔ اردھ ۔ الٹا لو لاگا۔ محبت میں مخمور۔ ادرمجھار۔ پیٹ میں ۔ا نت ۔ آخر (1) ہر دے ۔ ل میں۔ نمسکارا۔ سجدہ۔ س رجھکاؤ بطور ادب آداب ۔ نام ادھار۔ الہٰی نام سچ حق وحقیقت کا آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل پاک بدیاغ خدا کی ریاضت و عبادت کر ۔ ہمیشہ اس خدا کی طرف متوجو ہو دھیان لگا جو ارام و اسائش پہنچاتا ہے (جسکا) جس کی دوست کا کنارا اور آخرت معلوم نہیں ہو سکتی ۔ ہمیشہ اس میں دھیان لگا ؤ(1) رہاؤ۔ جب آگ کے تالاب مرادماں کے پیٹ الٹا الہٰی امحبت میں اسکی ریاض وعبادت میں محو ومجذوب تھا اور پیٹ میں اسکا محافظ تھا خدا اس لئے اسیے خدا جو اتنا با توفیق ہے کی خدمت و عبادت و بندگی کیجیئے جو بوقت اخرت نجات دلانے کی توفیق رکھتا ہے (1) جس کے دل میں بستا ہے خدا اس کو سجدہ کرؤ بطور آداب سر جھکاؤ ۔ اے نانک۔ بتادے الہٰی رحمت سے ہی الہٰی نام سچ حق وحقیقت کی ریاض عبادت و بندگی نصیب ہوتی ہے ۔ اور نام یعنی سچ حق و حقیت ہی اسکی زندگی کے لئے آسر وسہارا بن جاتا ہے ۔

بیَراڑیِ مہلا ੪॥
جپِ من ہرِ ہرِ نامُ نِت دھِیاءِ ॥
جو اِچھہِ سوئیِ پھلُ پاۄہِپھِرِدوُکھُنلاگےَآءِ॥੧॥ رہاءُ ॥
سو جپُ سو تپُ سا ب٘رتپوُجاجِتُہرِسِءُپ٘ریِتِلگاءِ॥
بِنُ ہرِ پ٘ریِتِہورپ٘ریِتِسبھجھوُٹھیِاِککھِنمہِ بِسرِ سبھ جاءِ ॥੧॥
توُ بیئنّتُ سرب کل پوُرا کِچھُ کیِمتِ کہیِ ن جاءِ ॥
نانک سرنھِ تُم٘ہ٘ہاریِہرِجیِءُبھاۄےَتِۄےَچھڈاءِ॥੨॥੬॥
لفظی معنی :
اچھیہہ۔ خواہش ۔ تمنا۔ (1) رہاؤ۔ جپ۔ ریاج۔ تپ۔ تپسیا ۔ برت۔ پرہیز گاری ۔ پوجا ۔ پرستش۔ جت ۔ جس سے ۔ پریت۔ پیار۔ ہر پریت۔ الہٰی عشق۔ محبت۔ کھن۔ پل۔ وسر۔ بھول (1) سرب کل ۔ پورا ۔ تمام قوقتوں میں کامل۔ بھاوے تو نے چھڈا ئے ۔ جیسے تیری رضا اسی طرح نجات دلا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل ہر روز ہمیشہ الہٰی نام سچ حق و حقیقت کی ریاض کیکر اور اس میںا پنی توجہ دے ۔ جیسی تیری خواہش ہوگی ویسی مرادیں پائیگا۔ اور عذآب نزدیک نہ آئیگا (1) رہاو۔ وہی ریاض یا د خدا ہی تپسیا پرہیز گاری وہی جس سے خدا سے محبت پایر بنے خدا کی محبت کے بغیر دوسری محبت جھوٹی ہے پل بھر میں بھول جاتی ہے (1) اے خدا تو اعداد و شمار سے بعید تمام قوتوں کا مالک اور کامل تیری قدروقیمت بیان نہیں ہو سکتی نانک تیری پشت پناہی میں جیسے تیری رضا ہے نجات دلا ۔

راگُ بیَراڑیِ مہلا ੫ گھرُ ੧
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
سنّت جنا مِلِ ہرِ جسُ گائِئو ॥
کوٹِ جنم کے دوُکھ گۄائِئو ॥੧॥ رہاءُ ॥
جو چاہت سوئیِ منِ پائِئو ॥
کرِ کِرپا ہرِ نامُ دِۄائِئو॥੧॥
سرب سوُکھ ہرِ نامِ ۄڈائیِ॥
گُر پ٘رسادِنانکمتِپائیِ॥੨॥੧॥੭॥
لفظی معنی :
روحانی رہنما کے ساتھ مل کر الہٰی حمدوچناہ کی دیرنہ کئے ہوئے کروڑوں جرم وگناہ عافو ہوئے (1) رہاؤ۔ جو دل کی خواہش تھی وہی ماد پائی اور کرم و عنیات سے الہٰی نام دلائیا (1) الہٰی نام کی عطمت و بلندی ہے کہ اسے سارے آرام و آسائش حاصل ہوتی ہے ۔ اے نانک۔ رحمت مرشد سے عقل و شعور ملا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس نے پاکدامن خدا رسیدہ روحانی رہنما و رہبر

راگُ تِلنّگ مہلا ੧ گھرُ ੧
ੴ ستِنامُ کرتا پُرکھُ نِربھءُ نِرۄیَرُاکالموُرتِاجوُنیِسیَبھنّگُرپ٘رسادِ॥
زک ارج گُپھتم پیسِ تو در گوس کُن کرتار ॥
ہکا کبیِر کریِم توُ بیئیَب پرۄدگار॥੧॥
دُنیِیا مُکامے پھانیِ تہکیِک دِل دانیِ ॥
مم سر موُءِ اجرائیِل گِرپھتہ دِل ہیچِ ن دانیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جن پِسر پدر بِرادراں کس نیس دستنّگیِر ॥
آکھِر بِئپھتم کس ن دارد چوُنّ سۄد تکبیِر ॥੨॥
سب روج گستم در ہۄاکردیمبدیِکھِیال॥
گاہے ن نیکیِ کار کردم مم ایِ چِنیِ اہۄال॥੩॥
بدبکھت ہم چُ بکھیِل گاپھِل بینجر بیباک ॥
نانک بُگوزد جنُ تُرا تیرے چاکراں پا کھاک ॥੪॥੧॥
لفظی معنی :
یک۔ ایک۔ عرض گفتم ۔ ایک عرض کہتا ہ وں۔ گوش کن ۔ کان کر۔ دھیان لگا۔ کرتار۔ قادر۔ کرنے والے ۔ خدا۔ حقا۔ تو حق ہے ۔ سچ ہے ۔ کبیر ۔ بلند عظمت۔ ہے ۔ کریم ۔ بخشنہار۔ بخشنے والا ہے ۔ بے عیب ۔ تجھ میں کوئی برائی نہیں۔ پرودگار ۔ اے پالنے ولاے (1) دنیا ۔ عالم ۔ جہاں۔ مقام فانی ۔ یہ عالم فناہ ہونے والا ہے ۔ تحقیق ۔ سوچ۔ سمجھ ۔ دل دانی ۔ دل سے سمجھ لے ۔ مم ۔ میرے ۔ سر موئے ۔ میرے سر کے بال۔ اجرائیل گوفتیہہ۔ فرشتہ موت ۔ جبرائی ل نے پکڑ رکھے ہیں۔ دل بیچ۔ کچھ بھی ۔ نہ دانی ۔ نہیں جانتا (1) رہاؤ۔ زن۔ بیوی۔ پسر۔ بیٹا۔ پدر۔ باپ۔ برداران۔ بھائی۔ کس ۔ کوئی ۔ نیس دستنگیر ۔ ہاتھ پکڑ تا ۔ مراد بچا سکتا ۔ آخر بییاختم۔ جب آخرت موقعہ آئیا ۔ کس نے دارد۔ کوئی نہیں رکھتا۔ چون ۔ شووتکبیر۔ جب نماز جنازہ ادا ہوجاتی ہے (2) شب روز۔ دن رات۔ در ۔ ہوا۔ غرور لالچ میں ۔ کرویم ۔ کرتے ہیں۔ بدیں۔ خیال۔ یہ خیلا۔ سوچ سمجھ ۔ گاہے ۔ کبھی ۔ نہ نیکی کار۔ نیک کام۔ کرویم کیا۔ مم ۔ میرا۔ ایں۔ چنیں احوال۔ اس طرح حال ہوا۔ (3) بد بخت۔ بد قسمت۔ ہمچوں بخیل۔ اس طرح چغل خور۔ غافل ۔ سست۔ لا پرواہ۔ بینظر۔ نا عاقبت ۔ اندیش ۔ ۔ بیباق۔ بیخؤف۔ بگیوید۔ کہتا ہے ۔ جن ترا۔ تیرا خادم۔ چاکراں۔ خادموں ۔ پاک ۔ پاؤں کی مٹی یا دہول ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے قادر میں تیرے پاس ایک عرض گذارتا ہوں غور سے سن تو سچا حق پہچاننے وال بلند عطمت مہربان بے عیب پاک اور پروردگار ہے (1٭ یہ دنیا یہ عالم مٹ جانے ولای ختم ہوجانے والی ہے دل میں سوچ لے سمجھ لے ۔ موت کے فرشتے عزائیل سر کے بال یو چوٹی پکڑی ہے ۔ مگر تو کچھ نہیں سمجھتا (1) رہاؤ۔ بیوی۔ بیٹا۔ باپ بھائی۔ انمیں سے کوئی بھی ہاتھ پکڑنے والا مددگار نہیں آخرت ۔ بوقت آخرت جب نماز جناز ادا ہو چکی کوئی نہیں رکھیگا (2) کبھی نیک کام نہ کیا اور مریا یہی حال رہ ۔ روز و شب حرص دہو میں بتائے (3) میرے جیسا بد قسمت بد نصیب نہیں کوئی جہاں میں چگل خور۔ بد گوئی کرنے والا بے حیا۔ بیخوف نہیں ہے ۔ اے خدا تیرا خادم نانک عرض گذارتا ہے کہ تیرے خدمتگاروں کے پاؤں کی خاک نصیب ہو۔

تِلنّگ مہلا ੧ گھرُ ੨
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
بھءُ تیرا بھاںگ کھلڑیِ میرا چیِتُ ॥
مےَ دیۄانا بھئِیا اتیِتُ ॥
کر کاسا درسن کیِ بھوُکھ ॥
مےَ درِ ماگءُ نیِتا نیِت ॥੧॥
تءُ درسن کیِ کرءُ سماءِ ॥
مےَ درِ ماگتُ بھیِکھِیا پاءِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کیسرِ کُسم مِرگمےَ ہرنھا سرب سریِریِ چڑ٘ہ٘ہنھا॥
چنّدن بھگتا جوتِ اِنیہیِ سربے پرملُ کرنھا ॥੨॥
گھِء پٹ بھاںڈا کہےَ ن کوءِ ॥
ایَسا بھگتُ ۄرنمہِہوءِ॥
تیرےَ نامِ نِۄےرہےلِۄلاءِ॥
نانک تِن درِ بھیِکھِیا پاءِ ॥੩॥੧॥੨॥
لفظی معنی :
بھؤ۔ خوف۔ ۔ بھانگ بھنگ۔ نشہ آور۔ ۔ کھلڑی ۔ گھتی ۔ چیت ۔ دل ۔ دیوانہ ۔ مست۔ انیت ۔ تیاگی ۔ پرہیز گار۔ کر ۔ ہاتھ ۔ کاسئہ ۔ پیالہ ۔ درسن ۔ دیدار ۔ در ۔ دروازہ ۔ نیتا نیت۔ ہر روز (1) تؤ۔ تیرے ۔ سمائے ۔ صدا۔ آواز۔ بھیکھیا۔ خیرات (1) رہاؤ۔ کیسر ۔ کیسر ۔ کسم۔ پھول۔ میر گمے ۔ کستوری ۔ ہرنا۔ سونا ۔ سرب سرہری ۔ تمام جسموں پر ۔ چندن ۔ خوشبودار ۔ مکڑی ۔ بھگتا جوت۔ محوبان الہٰی کی نورانی ۔ مراد الہٰی پریمیؤں کی خوشبو یا روشنی ۔ انیہی ۔ ایسے ہی ۔ سبے ۔ سب کو ۔ سریری چڑھنا۔ سارے جسموں کو معطر یا خوشبو دار بنا دیی ہ ے (2) گھیہہ۔ گھی ۔ پٹ۔ ریشم۔ ورن ۔ ذات۔ خاندان۔ تیرے نام۔ خدا کے نام۔ لولائے ۔ محبت کرئے ۔ تن در۔ ان کے دروازے پر بھیکھیا۔ خیرات۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا۔ میں تیرے در کا بھکاری ہوں مجھے خیرات دیجیئے ۔ تیرے دیدار کی صدا کرتا ہوں (1) رہاو۔ تیرا خوف و ادب میرے لئے نشہ اور بھنگ ہے اور میرا دل اسکے ڈالنے ولای تھلی ہے ۔ اور میں المست طارق الدنیا ہوگیا ہوں۔ میں در پر تیرے دیدار کی خیرات کے لئے ہاتھوں کو خیراتی کاسئہ بناتا ہوں ہاتھ پھیلاتا ہوں مجھے تیرے دیدار کی بھوک ہے ۔ میں تیرے در پر ہر روز مانگتا ہوں ۔ کیسر۔ پھول۔ کستویر اور سونا سب اسے استعمال کرتے ہیں۔ چندن سب کو خوشبو دیتا ہے ۔ اسطرح سے ۔ محبوبان و عاشقان الہٰی بھی سب کو اپنے نور سے منور کرتے ہیں روشنی عنایت کرتے ہیں بانٹتے ہیں (2) جیسے گھی اور ریشم کی بابت کوئی شکوہ نہیں کرتا۔ اس طرح سے عابد و عاشق الہٰی کسی ذات یا فرقہ سے ہو۔ اے نانک۔ جو خدا کے نام سچ حق حقیقت کو سر تسلیم ختم کرتے ہیں۔ اور محبت کرتے یں انکے دروازے سے خیرات سے دیدار کی خیرات حاصل ہوتی ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੧ گھرُ ੩
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
اِہُ تنُ مائِیا پاہِیا پِیارے لیِتڑا لبِ رنّگاۓ॥
میرےَ کنّت ن بھاۄےَچولڑاپِیارےکِءُدھنسیجےَجاۓ॥੧॥
ہنّءُ کُربانےَ جاءُ مِہرۄاناہنّءُکُربانےَجاءُ॥
ہنّءُ کُربانےَ جاءُ تِنا کےَ لیَنِ جو تیرا ناءُ ॥
لیَنِ جو تیرا ناءُ تِنا کےَ ہنّءُ سد کُربانےَ جاءُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کائِیا رنّگنْنھِ جے تھیِئےَ پِیارے پائیِئےَ ناءُ مجیِٹھ ॥
رنّگنْنھ ۄالاجےرنّگنْےَساہِبُایَسارنّگُن ڈیِٹھ ॥੨॥
جِن کے چولے رتڑے پِیارے کنّتُ تِنا کےَ پاسِ ॥
دھوُڑِ تِنا کیِ جے مِلےَ جیِ کہُ نانک کیِ ارداسِ ॥੩॥
آپے ساجے آپے رنّگے آپے ندرِ کرےءِ ॥
نانک کامنھِ کنّتےَ بھاۄےَآپےہیِراۄےءِ॥੪॥੧॥੩॥
لفظی معنی :
ایہہ تن ۔ یہ جسم ۔ مراد انسانی زندگی ۔ ۔ مائیا پائیا۔ دونیاوی دولت سے متاچر۔ زیر اثر ہے ۔ لب ۔ لالچ ۔ رنگ ۔ پریم پیار ۔ کنت ۔ خاوند ۔ مراد خدا ۔ نہ بھاوے ۔ نہیں چاہتا۔ چولڑا۔ ایسی انسانی زندگی یاجسم۔ دھن۔ عورت۔ سیجے ۔ خوآبگاہ ۔ اسکے دل بسے ۔ مراد اسے وصل نصیب ہو (1) تنا کے ان پر ۔ تیہہ ناوں ۔ تیرا نام۔ اے خدا مراد جو سچ حق و حقیقت پر کار بند (1) رہاؤ۔ کائیا۔ جسم ۔ ذہن ۔ رنگ ۔ پریم ۔ زیر اثر۔ ناؤں۔ مجیٹ ۔ نام جو صدیوی اور مستقل ہے ۔ مجیٹھ کے رنگ کی مانند۔ نہ ڈیٹھ ۔ نہیں دیکھا (2) چوے تتڑے ۔ جن کے دامن متاثر ہیں۔ کنت تناکے پاس ۔ خدا ان کا ساتھی ہے ۔ دہوڑ۔ پاؤں کی مٹی ۔۔ ارداس ۔ عرض ۔ گذارش (3) ساجے ۔ بناتا ہے ۔ رنگے ۔ پریم کراتا ۔ ندر ۔ نگاہ شفقت۔ کامن۔ عورت۔ کنتے ۔ خاوند ۔ بھاوے ۔ چاہتا ہے ۔ راوئے ۔ اسے اپنا وصل دیتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
قربان ہو ان پر بلہار ہوں ان پر جو تیرا نام لیتے ہیں اے خدا ۔ تیری رضا و بندگی کرتے ہیں۔ میںہمیشہ قربان ہوں ان پر۔ رہاؤ۔ یہ انسانی جسم اور زندگی دنیایو دولت سے متاثر ہے اور لالچ سے محبت اور پریم پیار ہے تو انسان کےد ل میں خدا کیسے بس سکتا ہے (1) مگر الہٰی محبت چاہتے ہو تو اسے الہٰی نام حق سچ اور حقیقت اپنا نا چاہیئے جو صدیوی انسانی ذہن کو متاثر کرتا ہے جو مجیٹھ کے رنگ کی مانند پختہ ہے کبھی اترتا نہیں۔ اگر خدا اس نام حق سچ وحقیقت سے متاچر کد دے تو اسیا متاثرہ دیکھنے میں نہیں آتا (2) جو اس نام سے متاثر نہیں خدا ان کا ساتھی ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ انکے پاؤں کی دہول حاصل ہو (3) اے نانک۔ جس پر الہٰی رحمت ہوتی ہے خدا خود اسکی طرز زندگی خودرست کرتا اور خود ہی الہٰی نام حق سچ وحقیقت سے متاثر کرکے اسکے دل میں بساتا ہے اور اس پر اپنی نظر عنایت و شفقت رکتھا ہے اور ازخود اسکا پیار دلدادہ محبتی ہوجاتا ہے ۔

تِلنّگ مਃ੧॥
اِیانڑیِۓمانڑاکاءِکریہِ॥
آپنڑےَ گھرِ ہرِ رنّگو کیِ ن مانھیہِ ॥
سہُ نیڑےَ دھن کنّملیِۓباہرُکِیاڈھوُڈھیہِ॥
بھےَ کیِیا دیہِ سلائیِیا نیَنھیِ بھاۄکاکرِسیِگارو॥
تا سوہاگنھِ جانھیِئےَ لاگیِ جا سہُ دھرے پِیارو ॥੧॥
اِیانھیِ بالیِ کِیا کرے جا دھن کنّت ن بھاۄےَ॥
کرنھ پلاہ کرے بہُتیرے سا دھن مہلُ ن پاۄےَ॥
ۄِنھُکرماکِچھُپائیِئےَناہیِجےبہُتیرادھاۄےَ॥
لب لوبھ اہنّکار کیِ ماتیِ مائِیا ماہِ سمانھیِ ॥
اِنیِ باتیِ سہُ پائیِئےَ ناہیِ بھئیِ کامنھِ اِیانھیِ ॥੨॥
جاءِ پُچھہُ سوہاگنھیِ ۄاہےَکِنیِباتیِسہُپائیِئےَ॥
جو کِچھُ کرے سو بھلا کرِ مانیِئےَ ہِکمتِ ہُکمُ چُکائیِئےَ ॥
جا کےَ پ٘ریمِپدارتھُپائیِئےَتءُچرنھیِچِتُلائیِئےَ॥
سہُ کہےَ سو کیِجےَ تنُ منو دیِجےَ ایَسا پرملُ لائیِئےَ ॥
ایۄکہہِسوہاگنھیِبھیَنھےاِنیِباتیِسہُپائیِئےَ॥੩॥
آپُ گۄائیِئےَتاسہُپائیِئےَ ائُرُ کیَسیِ چتُرائیِ ॥
سہُ ندرِ کرِ دیکھےَ سو دِنُ لیکھےَ کامنھِ نءُ نِدھِ پائیِ ॥
آپنھے کنّت پِیاریِ سا سوہاگنھِ نانک سا سبھرائیِ ॥
ایَسےَ رنّگِ راتیِ سہج کیِ ماتیِ اہِنِسِ بھاءِ سمانھیِ ॥
سُنّدرِ ساءِ سروُپ بِچکھنھِ کہیِئےَ سا سِیانھیِ ॥੪॥੨॥੪॥
لفظی معنی :
ایانٹریئے ۔ انجان ۔ نا اندیش۔ نادان۔ مانٹرا۔ غرور۔ تکبر ۔ وقار۔ کائے ۔کیوں۔ آپتڑے ۔ آپنے ۔ گھر ۔ دلمیں۔ ہر رنگو۔ الہٰی پیار ۔ کی نہ مانیہہ۔ کیوں لطف نہیں لیتی ۔ سوہ نیڑے ۔ خدا نزیدک ہے ۔ ڈہونڈے ۔ تلاش کرتا ہے ۔ بھے ۔ خوف۔ صلائیا ۔ سرمہ آنکھوں میں ڈالنے ولای ۔ صلائی ۔ نینی ۔ آنکھوں ۔ بھاو۔ پریم ۔ پیار ۔ سیگارو۔ سجاوٹ۔ سوہاگن ۔ خادن کی پیاری ۔ خدا پرست۔ سوہ دھیرے پیارو۔ خاوند کی پیاری ۔ تبھی خاوند محبت کریگا۔ مراد خدا کی محبت حاصل ہوگی (1) ایانی ۔ انجان۔ نادان۔ بالی ۔ بچپن میں۔ دوشیزہ ۔ نوجوان۔ کنت نہ بھاوے ۔ خاوند کو پیاری نہیں مراد خدا کی محبت حسآل نہیں۔ کرن بلاہ ۔ منت سمجاجت۔ محل۔ ٹھکانہ ۔ بن کرما۔ بغیر اعمال ۔ بغیر الہٰی کرم و عنایت ۔ بخشش۔ دھاوے ۔ دوڑ دہوپ۔ لب لوھب ۔ لالچ۔ اہنکار کی ماتی ۔ تکبر میں محو۔ مائیا ماہے ۔ سمانی ۔ دنیاوی دولت میں محو ومجذوب ۔ ب کامن ایانی ۔ انسانی نا اہلیت میں ہے (2) سوہانگنی واہے ۔ خاوند پر ستار۔ خدا پر پرستوں سے ۔ کنی باتیں۔ کونسے اوصاف اور طرقیوں سے ۔ سوہ پاییئے ۔ الہٰی وسل حآصل ہوئے ۔ بھلا۔ اچھا۔ حکمت۔ دانائی ۔ حکم چکاییئے ۔ فرمان روائی ختم کریں۔ جاکے ۔ جس کے ۔ پریم پدارتھ۔ پریم سے نعمتیں ملتی ہیں۔ تو چرنی چت لاییئے ۔ اسکا ادب و اداب بجا لائیں ۔ دلی محبت اور پریم سے ۔ سوہ گہے سوکیجے ۔ تنوں منودیجے ۔ دل وجان سے اسکی فرمانبرداری کرؤ ۔ پرمل۔ خوشبو۔ وی۔ اسطرح ۔ انی ۔ باقی ۔ا س طریقے سے ۔ سوہ پاییئے ۔ وصل الہٰی نصیب ہوتا ہے (3) آپ گواییئے ۔ خود ختم کرکے ۔ چترائی ۔ چالاک ی۔ دانشنمندی ۔ سوہ ندرکر دیکھے ۔ خدا کی نظر عنایت و شفقت ۔ لیکھے حساب میں۔ نوندھ ۔ نو خزانے ۔ سبھرائی ۔ سب میں ادب و اداب کی مستحق ۔ رنگ راتی ۔ پریم پیار میں محو ومجذوب ۔ سہج کی ماتی ۔ روحانی سکون میں محو۔ اہنس ۔ روز و شب۔ بھاے ۔ پیار پریم میں۔ سندر۔ خوبصورت۔ سبائے ۔ وہی ۔ سروپ ۔ شکل وصورت۔ بچھکھن۔ بلند عقل و شعور ۔ سیانی ۔ دانشمند
ترجمہ معہ تشریح:
اے میری نادان روح یا جان اتنا غرو ر کیوں کرتی ہے خدا تیرے دل میں بستا ہے اسکے پیار سے ملاپ کویں سکون اور خوشی حاصل نہیں کریت ۔ اے نادان انسان خدا نزیدک ہے باہر کیا تلاش کرتا ہے انکھوں میں الہٰی خوف و اددب کےس رمے کی سلائیاں آلوںا ور الہٰی پیار سے پانے آپ کو سجاؤ خدا پرست انسان تبھی ہو سکتا ہے اور سمجھا جاتا ہے جب خدا سے محبت کرے (1) نادان انسان کر بھی کیا سکتا ہے ۔ جب اسے الہٰی خوشنودی حاصل نہ ہو۔ وہ خواہ کتنی ہی منت سماجت کیوں نہ کرے منزل نہیں پا سکتا انسان خواہ کتنی دوڑ دہوپ جہدوترود کرے بغیر الہٰی نظر کرم عنایت لا حاصل ہے ۔ اگر انسان لذتوں لالچ اور غرور میں مدہوش رہے اور دنیاوی دلوت کی محبت میں مستفر قرہے تو اس طرحس ےا لہٰی وصل حآصلنہیں ہو سکتا اور انسان نا واقف ہی رہتا ہے (2) خدا پرستوں کے پاس جاکر دریافت کرؤ کہ وہ کونسے وصف ہیں جن کے ذریعے الہٰی وصف ہ حاصل ہوتا ہے ۔ خدا جو کچھ کرتا ہے اسے اچھا سمجھو دانئی اور زور و رہبر چھوڑ و ۔ جس کے پریم پیار نعمتیں حاصل ہوتی ہیں۔ اسکا نہ دل سے ادب و اداب کرؤ ۔ جو فرامن وہ کرتا ہے کرؤ اور دل و جان اسے بھینٹ کردو۔ ایسی خوشنودی حاصل کرؤ۔ خدا پرستوں کا فرمان ہے کہ اس طرح سے الہٰی حاصل ہوتا ہے (3)
الہٰی وصل خود ی مٹا کے ہی حاصل ہو سکتا ہے ۔ اسکے علاوہ دوسری دانائیاں بیکار ہیں۔ وہی وقت حساب یا اعمالنامے میں ہیں جس میں الہٰی نظر عنایت و شفقت ہے ۔ سمجھو نو خزانے حاصل ہوگئے ۔ اے نانک۔ جس نے الہٰی خوشنودی اور محبت پیار پالیا وہ خوش قسمت ہے ۔ ایسے پریم پیار میں محو ومجذوب انسان روحآنی سکون پاتا ہے اور روز و شب الہٰی محبت میں محو وہرتا ہے ۔ اسے ہی خوبصورت با عقل و شعور اور دانشمند کہا جا سکتا ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੧॥
جیَسیِ مےَ آۄےَکھسمکیِبانھیِتیَسڑاکریِگِیانُۄےلالو॥
پاپ کیِ جنّجنْ لےَ کابلہُ دھائِیا جوریِ منّگےَ دانُ ۄےلالو॥
سرمُ دھرمُ دُءِ چھپِ کھلوۓ کوُڑُ پھِرےَ پردھانُ ۄےلالو॥
کاجیِیا بامنھا کیِ گل تھکیِ اگدُ پڑےَ سیَتانُ ۄےلالو॥
مُسلمانیِیا پڑہِ کتیبا کسٹ مہِ کرہِ کھُداءِ ۄےلالو॥
جاتِ سناتیِ ہورِ ہِدۄانھیِیاایہِبھیِلیکھےَلاءِ ۄےلالو॥
کھوُن کے سوہِلے گاۄیِئہِنانکرتُکاکُنّگوُپاءِۄےلالو॥੧॥
ساہِب کے گُنھ نانکُ گاۄےَماسپُریِۄِچِآکھُمسولا॥
جِنِ اُپائیِ رنّگِ رۄائیِبیَٹھاۄیکھےَۄکھِاِکیلا॥
سچا سو ساہِبُ سچُ تپاۄسُسچڑا نِیاءُ کریگُ مسولا ॥
کائِیا کپڑُ ٹُکُ ٹُکُ ہوسیِ ہِدُستانُ سمالسیِ بولا ॥
آۄنِاٹھترےَجانِستانۄےَہورُبھیِاُٹھسیِمردکاچیلا॥
سچ کیِ بانھیِ نانکُ آکھےَ سچُ سُنھائِسیِ سچ کیِ بیلا ॥੨॥੩॥੫॥
لفظی معنی :
خصم۔ مالک ۔ مراد۔ خدا۔ تیسٹرا۔ ویسا۔ بانی ۔ فرمان۔ کلام ۔ گیان۔ سمجھ ۔ علم ۔ واقفیت ۔ پاپ۔ گنہا۔ جرم۔ جنج۔ فوج ۔ دھیائیا۔ حملہ کیا۔ جوری ۔ جورو۔ عورت۔ زبردستی ۔ دان ۔ خیرات۔ سرم دھرم۔ حیا فرض شناسی ۔ کوڑ۔ جوھٹھ ۔ پردھان۔ بلند حیثیت ۔ قاجٰا بہمنا کی گل تھکی ۔ قاضی اور برہمن ۔ چھوڑ کر ۔ اگد۔ نکاہ ۔ پھیرے ۔ مسلمانیا پڑھیہہ کتیاں ۔ اسلامی کتابوں کی آیتیں پڑھتی ہیں اور خدا خدا پکارتی ہیں۔ کشٹ ۔ عزآب ۔ تکلیف ۔ ذات سناتی ۔ نیچی ذات۔ ہندوانیاں ۔ ہندو عورتیں۔ لیکھے لاے ۔ اسی طرح کا سلوک اور حساب۔ خون ۔ کے سوہلے ۔ خونی گیت۔ مراد کیرنے اور وین۔ رت۔ خون ۔ کنگو ۔ کہسر (1) صاحب کے گن۔ الہٰی اوصاف ۔ ماس پری ۔ لاشوں کا شہر۔ مسولہ ۔ مسلہ ۔ اصول کی بات۔ حقیقت۔ اپائی ۔ پیدا کی ۔ رن گروائی ۔ بناؤ سنگار۔ کیا۔ وکھ ۔ علیحدہ۔ سچا ۔ صدیوی ۔ ساحب۔ مالک۔ آقار۔ سچ تپاوس۔ سچا۔ انصاف۔ سچڑانیاؤں گریگو ۔ مسولا مسئلے ۔ حقیقی سچا انصاف کریگا۔ کائیا۔ جسم۔ ٹک ٹک ہو سی ۔ ٹکڑے ٹکڑے ہوگا۔ سمالسی ۔ یاد کریگا۔ بولا۔ بول۔کلام۔ مراد کا چیلہ ۔ بہادر۔ سچ کی بانی ۔ الہٰی کلام ۔ آکھے ۔ کہتا ہے ۔ سنائیسی ۔ سناتا ہے ۔ سچ کی بیلا ۔ الہٰی موقعہ
ترجمہ معہ تشریح:
اے لالو۔ جیسا مجھے الہٰی الحام ہواا ویسا ہی واقفیت تجھے دیتا ہوں۔ کابل سے ظلم کی فوج لیکر حملہ آور ہوا اور ۔ ظلم و ستم سے حکومت کی خیرات چاہتا ہے ۔ شرم و حیات اور انسانی فرائض ختم ہوگئے جھوٹ کا بول بالا ہے ۔ قاضی اور برہمنوں کے رسم و رواج شیرع اور مریادا ختم ہوچکی ہے ۔ شیطانی قانون رائج ہوگیا ہے ۔ مسلمان عورتیں اسلامی کتابوں کی مطابق آئیتیں پڑھتی ہیں عذاب اور مصیبت میں خدا کا نام لیتی ہیں۔ نیچ ذات والی اور ہندو عورتیں بھی اسی حساب میں ہیں اور خونی گیت مراد کیرنے اور دین پائے جا رہے ہیں اور خون کا کیسر کی جگہ چھڑ کا ؤ ہور رہا ہے (1) اس لاشوں کے ابنا رلگے شہر میں نانک الہٰی حمدوچناہ کر رہا ہے ۔ قانون قدرت بیان کر کہ جس نے یہ عالم پیدا کیا ہے اس نے اسے دنیاوی دولت کی محبت میں محو ومجذوب کیا ہوا ہے ۔ اور خؤد اس بیباق رہ کر ان کارناموں پر اپنی نگاہ رکھ رہا ہے ۔ خدا دنیا کا سچا مالک ہے صدیوی ہے اور اسکے قانون بھی دائمی ہیں اور انصاف بھی سچا اور دائمی ہے انسانی جسم ٹکڑے ٹکڑے ہوکر بکھرے پڑے ہیں یہ ایک ایسا خوفناک واقہ ہے جو کبھی بھلائیا نہیں جا سکے گا ہندو سان یہ سمت اتھترا آئے ہیں اور ستانوے میں چلے جائیں گے ۔ اور بھی کوئی مرو مجاہد آئے گا۔ اُٹھے گا پیدا ہوگا۔ نانک صدیوی قائمد ائم خدا کی حمدوچناہ کرتا ہے اور کرتا رہیگا ۔ کیونکہ یہی الہٰی حمدوثناہ کا موقعہ ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੪ گھرُ ੨
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
سبھِ آۓہُکمِکھسماہُہُکمِسبھۄرتنیِ ॥
سچُ ساہِبُ ساچا کھیلُ سبھُ ہرِ دھنیِ ॥੧॥
سالاہِہُ سچُ سبھ اوُپرِ ہرِ دھنیِ ॥
جِسُ ناہیِ کوءِ سریِکُ کِسُ لیکھےَ ہءُ گنیِ ॥ رہاءُ ॥
پئُنھ پانھیِ دھرتیِ آکاسُ گھر منّدر ہرِ بنیِ ॥
ۄِچِۄرتےَنانکآپِجھوُٹھُکہُکِیاگنیِ॥੨॥੧॥
لفظی معنی :
حکم خصما ہو۔ تابع فرمان الہٰی ۔ حکم سبھ درتنی ۔ سب پر الہٰی فرمان لاگو ہے ۔ سچ صاحب ۔ خدا حقیقت اور صدیوی ہے ۔ ساچا کھیل۔ حقیقت پر مبنی ایک کھیل۔ دھنی ۔ مالک (1) صالوجیؤ سچ۔ خدا کی صفت صلاح کرؤ۔ سب اورپر ہر دھنی ۔ خدا سب سے بلند رتبے والا ہے اور سب اسکے تابعد ہیں۔ شریک ۔ ثانی ۔ کس لیکھے ۔ کس حساب میں۔ (1) رہاؤ۔ پؤن ۔ ہوا۔ بنی ۔ جنگل۔ وچ ورتے میں۔ بس رہا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کی صفت صلاح کرؤ جس کی سب کے اوپر حکمرانی ہے ۔ جو سبھ کا مالک ہے اور سب سے بلند رتبہ والا ہے جسکا کوئی ثانی نہیں اسے کس حساب میںش مار کرؤں۔ رہاؤ۔ سارے اس عالم میں زیر فرامن الہٰی پدیا ہوئے ہیں۔ سارے اس حکم کے تابعد ہی کام کر رہے ہیں۔ صدیوی قائم دائم ہے خدا اور صدیوی ہے اسکا کھیل سب کا وہ مالک ہے (1) ہوا پانی زمین آسمان ۔ گھر ۔ مکان ۔ جنگل۔ میں بستا ہے ۔ خدا اے نانک بتاؤ جھوٹ کسے کہوں۔

تِلنّگ مہلا ੪॥
نِت نِہپھل کرم کماءِ بپھاۄےَدُرمتیِیا॥
جب آنھےَ ۄلۄنّچ کرِ جھوُٹھُ تب جانھےَ جگُ جِتیِیا ॥੧॥
ایَسا باجیِ سیَسارُ ن چیتےَ ہرِ ناما ॥
کھِن مہِ بِنسےَ سبھُ جھوُٹھُ میرے من دھِیاءِ راما ॥ رہاءُ ॥
سا ۄیلاچِتِنآۄےَجِتُآءِکنّٹکُکالُگ٘رسےَ॥
تِسُ نانک لۓ چھڈاءِ جِسُ کِرپا کرِ ہِردےَ ۄسےَ॥੨॥੨॥
لفظی معنی :
نت۔ ہر روز۔ نہفل۔ بیکار ۔ فضول۔ کرم ۔ اعمال۔ بغاوئے ۔ شیخی بھگارتا ہے ۔ لاف زنی کرتا ہے ۔ خودی میں پھولتا ہے ۔ غرور کرتاہے ۔ درمتیا۔ بد عقل ۔ بلونچ۔ دہوکا۔ فریب۔ جگ جتیا ۔ عالم فتح کر الیا (1) باجی ۔ بازی ۔ کھیل۔ سیسار۔ علام ۔ دنیا ۔ سنسار ۔ جیتے ۔ یاد کرتا ہے ۔ ہر ناما۔ الہٰی نام سچ حق وحقیقت ۔ کھ میہہ۔ تھوڑے سے وقفے کے اندر۔ ونسے ۔ مٹ جاتا ہے ۔ دھیائے ۔ دھیان لگا ۔ توجہ کر ۔ رہاؤ۔ ساویلا۔ وہ وقت ۔ چت نہ آوے ۔ دلمیں خیال نہ اتا ہے ۔ جت ۔ جب۔ کال۔ موت۔ کنٹک ۔ کانٹا ۔ گر سے ۔ اپنی گرفت میں لے لیگی ۔ تس ۔ اسے ۔ ہروے بسنے ۔ دلمیں بس جائے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل یہ عالم یہ جہان ایک ایسا کھیل ہے جس میں خدا یاد نہیں رہتا انسان سچ وحقیقت بھلا دیتا ہے مگر یہ سارا پل بھر میں مٹ جاتا ہے یہ کوڑ اور جھوٹ ہے اے دل تو الہٰی نام سچ حق و حقیقت میںا پنا دھیان جما توجہ کر ۔ رہاؤ۔ انسان ہر روز فضول بیکار کاموں میں مشغول رہتا ہے بد عقل اسکے باوجود جب دہوکا بای جھوٹ بول کر لے آتا ہے تو لاف زنی کرتا ہے اور اسطرح اکڑ فوں کرتا ہے جیسے عالم پر فتح حاصل کر لی ہو (1) اے دل اس بے عقل انسان کو وہ وقت یاد نہیں جب موت نے اپنی گرفت میں لے لینا ہے اے نانکل جس انسان کو خدا نے اپنی ہی کرم وعنایت سے اسکے دل میں بس گیا اسے روحانی یا اخلاقی موت سے چھڑا لیتا ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੫ گھرُ ੧
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
کھاک نوُر کردنّ آلم دُنیِیاءِ ॥
اسمان جِمیِ درکھت آب پیَدائِسِ کھُداءِ ॥੧॥
بنّدے چسم دیِدنّ پھناءِ ॥
دُنیِیا مُردار کھُردنیِ گاپھل ہۄاءِ॥ رہاءُ ॥
گیَبان ہیَۄانہرامکُستنیِمُرداربکھوراءِ॥
دِل کبج کبجا کادرو دوجک سجاءِ ॥੨॥
ۄلیِنِیامتِبِرادرا دربار مِلک کھاناءِ ॥
جب اجرائیِلُ بستنیِ تب چِ کارے بِداءِ ॥੩॥
ہۄالمالوُمُکردنّپاکالاہ॥
بُگو نانک ارداسِ پیسِ درۄیسبنّداہ॥੪॥੧॥
لفظی معنی :
خاک ۔ مٹی ۔ نور۔ روشنی ۔ کرداً ۔ کیا ہے ۔ علام دنایئے ۔ یہ جہان ۔ آب۔ پانی ۔ پیدائ ش۔ خدا کے ۔ خدا نے پیدا کیا ہے ۔ بندے ۔ اے انسان ۔ چشم۔ آنکھ ۔ دیداً ۔ دیکھ رہا ہے ۔ فنائے ۔ مٹ جانے والا۔ فناہ ہو جانے والا۔ مردار۔ حرام ۔ جو بلا محنت و مشقت سے حاصلہو۔ مرے ہوئے ۔ خوردنی ۔ کھانے ولای ۔ غافل۔ لرپرواہ ۔ سست۔ ہوا لے ۔ لاچی ۔ رہاؤ۔ غیبان ۔ نظر نہ آنے والی روحیں ۔ حیوان۔ مویشی ۔ حرام کشتی ۔ بغیر محنت و مشقت مارتے ہیں۔ بخورائے ۔ کھاتے ہیں۔ قبض ۔ بضا۔ مکمل طور پر قبض۔ قادر۔ جو سب کچھ کرنے کی توفیق رکھتا ہے ۔ قادر مطابق ۔ دوزک سزائے ۔ دوزخ کی سزا دیتا ہے (2) دلی ۔ باتوفیق ۔ قیمات ۔ نعمت ۔ دلی ۔ نیامت۔ جس میں۔ عنایت کرنے کی توفیق ہے ۔ برادراں۔ بھائیوں۔ ملک ۔ جائیداد۔ خانائے ۔ مکان۔ گھر ۔ عزائیل۔ فرشتہ موت۔ بستنی ۔ باندھتا ہے ۔ چہ کار۔ کس کام ۔ بدائے ۔ جاتے وقت (3) حؤال معلو م کر دا۔ حالت جانتا ہے ۔ بگو۔ کہہ۔ پیش۔ سہامنے ۔ درویش بندا ہے ۔ درویشوں کے پاس۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان جو کچھ آنکھوں سے دیکھ رہا ہے مٹ جانے والا ہے ۔ مگر دنیاوی لوگ غفلت اور نادانی میں دوسروں کا حق جو انسان کے لئے حرام ہے کھاتے ہیں۔ رہاؤ۔ انسان ۔ خدا نے مٹی اور نور یا روشنی سے عالم پیدا کیا ہے آسمان زمین درخت پائی غرض یہ کہ تمام قائنات خدا نے پیدا کی ہے (1) غیبی بد روحوں اور حیوناوں کی مانند حرام مار کر حرام کھاتا ہے ۔ دل پر دنیاوی دؤلت نے مکمل طور پر قبضہ کیا ہوا ہے ۔ قادر مطلق دوزخ کی سزا دیگا (2) جب فرشتہ موت آکر۔ اسے گرفتار کر لیتا ہے تو پرورش کرنے والے ماں باپ بہن بھائی بوقت آخرت کوئی کام نہیں آتا (3) پاک خدا کو تمام حالات معلوم ہیں۔ اے نانک بتادے ۔ صحبت و قربت پارسایاں خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبروں رہنماوں میں رہ کر خدا کے در پر عرض گذار۔ مراد تجھے دنیاوی دولت کی حرص میں نہی پھنسے۔

تِلنّگ گھرُ ੨ مہلا ੫॥
تُدھُ بِنُ دوُجا ناہیِ کوءِ ॥
توُ کرتارُ کرہِ سو ہوءِ ॥
تیرا جورُ تیریِ منِ ٹیک ॥
سدا سدا جپِ نانک ایک ॥੧॥
سبھ اوُپرِ پارب٘رہمُداتارُ॥
تیریِ ٹیک تیرا آدھارُ ॥ رہاءُ ॥
ہےَ توُہےَ توُ ہوۄنہار॥
اگم اگادھِ اوُچ آپار ॥
جو تُدھُ سیۄہِتِنبھءُدُکھُناہِ॥
گُر پرسادِ نانک گُنھ گاہِ ॥੨॥
جو دیِسےَ سو تیرا روُپُ ॥
گُنھ نِدھان گوۄِنّدانوُپ॥
سِمرِ سِمرِ سِمرِ جن سوءِ ॥
نانک کرمِ پراپتِ ہوءِ ॥੩॥
جِنِ جپِیا تِس کءُ بلِہار ॥
تِس کےَ سنّگِ ترےَ سنّسار ॥
کہُ نانک پ٘ربھلوچاپوُرِ॥
سنّت جنا کیِ باچھءُ دھوُرِ ॥੪॥੨॥
لفظی معنی :
زور۔ طاقت۔ ٹیک۔ آصرا۔ پار برہم ۔ پار لگا نے والا۔ کامیابی بخشنے والا۔ آدھار۔ بنیاد۔ سہارا۔ رہاؤ۔ ہوونہار۔ ہونے والا۔ صدیوی ۔ اگم۔ انسانی رسائی ۔ عقل وہوش سے اوپر۔ اکادھ ۔ جسکا اندازہ نہ ہو سکے ۔ اپار۔ جس کی وسعت کا پتہ نہ لگ سکے ۔ گر پرساد۔ رحمت مرشد سے (2) روپ ۔ شکل۔ انوپ۔ انوکھا ۔ گن ندھان ۔ اوصاف کا خزانہ ۔ کرم ۔ بخشش (2) جن ۔ جس نے ۔ جپیا۔ ریاض کی ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ لوچا۔ خواہش۔ کامنا۔ امنگ۔ باچھو۔ چاہتا ہوں ۔ دہور۔ دہول۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا ساری قائنات سے بلند عظمت بلند ہستی ہے تیری اے سخی تیرا ہی آصرا اور سہار ا ہے ۔ رہاؤ۔ تو سارےع الم کو پیدار کرنے والا ہے تیرے بغیر تیرے جیسی کوئی دوسری ہستی نہیں جو کچھ تو کرتا ہے وہی ہوتا ہے تیری ہی دل میں دی ہوئی طاقت اور سہارا ہے اے نانک ہمیشہ اسکے نام کی ریا ض کر (1) اے انسانی رسائی عقل و ہوش سے بلند تر خدا اعداد و شمار سے باہر تو ہی ہے تیری ہی ہر جگہ ہستی ہے اور صدیوی ہے جو تجھے یاد کرتے ہیں تیری ریاض کرتے ہیں ان پر کوئی عذآب اثر انداز نہیں ہوتا نہ آتا ہے نہ انہیں کوئی خوف رہتا ہے رحمت مرشد سے اسکی حمدو ثناہ کرؤ (2) اے اوصاف کے خزانے خدا جو اس قائنات قدرت میں نظر آتا ہے تیری ہی شکل وصورت ہے اے انسان ہمیشہ خدا کو یاد کر تارہ یہ یادریاض الہٰی کرم و عنایت سے ملتی ہے (3) جو کرتا ہے یاد خدا اس پر قربان ہوں میں اسکے ساتھ اور صحبت و قربت سے سارا عالم اس دنیاوی زندگی کے سمندر کو عبور کر لیتا ہے مراد زندگی کامیاب سہنری اور خوشبوؤں سے بھر لیتا ہے ۔ اے نانک بتادے کہ میری خواہش پوری کر میں تیرے در سے پاکدامن خدا رسیدہ روحانہ رہنما و رہبروں کے پاؤں کی دہول مانگتا ہوں۔

تِلنّگ مہلا ੫ گھرُ ੩॥
مِہرۄانُساہِبُمِہرۄانُ॥
ساہِبُ میرا مِہرۄانُ॥
جیِء سگل کءُ دےءِ دانُ ॥ رہاءُ ॥
توُ کاہے ڈولہِ پ٘رانھیِیا تُدھُ راکھیَگا سِرجنھہارُ ॥
جِنِ پیَدائِسِ توُ کیِیا سوئیِ دےءِ آدھارُ ॥੧॥
جِنِ اُپائیِ میدنیِ سوئیِ کردا سار ॥
گھٹِ گھٹِ مالکُ دِلا کا سچا پرۄدگارُ॥੨॥
کُدرتِ کیِم ن جانھیِئےَ ۄڈاۄیپرۄاہُ॥
کرِ بنّدے توُ بنّدگیِ جِچرُ گھٹ مہِ ساہُ ॥੩॥
توُ سمرتھُ اکتھُ اگوچرُ جیِءُ پِنّڈُ تیریِ راسِ ॥
رہم تیریِ سُکھُ پائِیا سدا نانک کیِ ارداسِ ॥੪॥੩॥
لفظی معنی :

صاصب ۔ آقا۔ مالک۔ جیئہ ۔ جاندار۔ سگ۔ سارے ۔ دان۔ خیرات۔ رہاؤ۔ کاہے ۔ کیوں۔ دولے ۔ ڈگمگانا ۔ بھگرانا۔ پریشان ہونا۔ پرانیا ۔ اے انسان۔ سرجنہار۔ پیدا کرنے والا۔ آدھار ۔ آسرا (1) اپائی ۔ پیدا کی ۔ خبر گیری ۔ پروردگار۔ پرورش کرنے والا (2) کیم ۔ قیمت۔ قدر۔ بے پرواہ۔ بے محتاج۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں۔ پروردگار۔ بندگی ۔ عبادت۔ اطاعت ۔ تابعداری (3) سمرتھ ۔ باتوفیق ۔ اکتھ ۔ نا قابل بیان ۔ جیؤ ۔ پنڈ۔ جسم و روح۔ راس۔ پونجی ۔ سرمایہ۔ ارداس ۔ عرض ۔
ترجمہ معہ تشریح:
رحمان الرحیم ہے خدا ہمیشہ مہربانیاں کرتا ہے اور سب کو نعمتیں بطور خیرات دیتا ہے ۔ رہاؤ۔ اے انسان تو کیوں ڈگمگاتا ہے پریشان ہوتا ہے جس نے تجھے پیدا کیا ہے وہ تیرا محافظ بھی ہے تیری حفاظت کریگا جس نے تجھے پیدا کیا ہے زندگی بخشی ہے آسرا بھی دیگا (1) اے انسان جس خدا نے یہ عالم بنائیا ہے وہ اسکی سنبھال بھی کرتا ہے ۔ سب کےد لوں میں بسنے والا خدا سب کے دلوں کا مالک ہے اور سب کی پرورش کرنے والا ہے (2) خدا بے محتاج ہے اسکی قدرت کی قیمت سمجھ ہیں آتی ۔ وہ بھاری بے محتاج ہے ۔ اے انسان جب تک تو زندہ ہے اور جب تک سانس جاری ہیں اس خدا کی عبادت کر (3) اے خدا تو قسم کی توفیق رکھتا ہے تیری بابت کچھ بیان نہیں ہو سکتا کہ تو کیسا ہے ۔ تیری شکل وصورت بیان سے باہر ہے تو انسانی عقل و ہوش سے بالا تر ہے اور انسانی رسائی سے بعید ہے تمام جانداروں کی جان اور جسم تیرا سرمایہ ہیں اور تیرے ہی بخشش ہیں نانک عرض گذارتا ہے کہ اے خدا تیری رحمت سے ہی انسان کو آرام و آسائش حاصل ہوتی ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੫ گھرُ ੩॥
کرتے کُدرتیِ مُستاکُ ॥
دیِن دُنیِیا ایک توُہیِ سبھ کھلک ہیِ تے پاکُ ॥ رہاءُ ॥
کھِن ماہِ تھاپِ اُتھاپدا آچرج تیرے روُپ ॥
کئُنھُ جانھےَ چلت تیرے انّدھِیارے مہِ دیِپ ॥੧॥
کھُدِ کھسم کھلک جہان الہ مِہرۄانکھُداءِ॥
دِنسُ ریَنھِ جِ تُدھُ ارادھے سو کِءُ دوجکِ جاءِ ॥੨॥
اجرائیِلُ زارُ بنّدے جِسُ تیرا آدھارُ ॥
گُنہ اُس کے سگل آپھوُ تیرے جن دیکھہِ دیِدارُ ॥੩॥
دُنیِیا چیِج پھِلہال سگلے سچُ سُکھُ تیرا ناءُ ॥
گُر مِلِ نانک بوُجھِیا سدا ایکسُ گاءُ ॥੪॥੪॥
لفظی معنی :
کرتے ۔ کرنے والے ۔ قادر۔ قدرتی ۔ تیری بنائی ہوئی قائنات ۔ مستاق۔ مشتاق ۔ عاشق۔ پیارا۔ خواہشمند۔ دین ۔ مذہبی ۔ دنیا ۔ دنیاوی ۔ خلق۔ خلقت۔ پاک۔ بیداغ۔ رہاؤ۔ کھن مینہہ۔ نہایت کم وقت میں۔ تھاپ۔ پیدا کرکے ۔ اتھا پدا ۔ مٹا دیتا ہے ۔ اچرج ۔ حیران کرنے والی ۔ روپ ۔ شکل و صورت ۔ چلت ۔ ریقہ کار۔ اندھیارے میں دیپ۔ اندھیرے میں چراغ (1) خود خصم خلق۔ خصم۔ مالک ۔ خلق خلقت۔ جہان ۔ دنیا ۔ الہہ۔ اے خدا۔ دنس رین روز و شب ۔ دن رات ۔ ارادے ۔ عبادت و رضت۔ دوجک۔ دوزخ (2) عزائیل ۔ فرشتہ موت ۔ یار دوست۔ بندے ۔ اے انسان۔ آدھار۔ آسرا۔ پشت پناہی ۔ گناہ۔ دوش۔ جرم۔ سگل۔ سارے ۔ عافو۔ مٹ جاتے ہیں۔ معاف ہوجاتے ہیں۔ تیرے جن ۔ تیرے خادم خدمتگتار ۔ دیکھہہ دیدار ۔ دیدار پاتے ہیں (3) دنیا چیز۔ دنیاوی نعمتیں۔ خلہال۔ ۔ وقتی طور پر ۔ سگلے ۔ سارے ۔ سچ سکھ تیرا ناؤں۔صدیوی آرام و آسائش تیرے نام سچ وحقیقت میں ہے ۔ بوجھیا۔ سمجھیا۔ سدا ایکس گاؤ ۔ جیہہ واحد خدا کی حمدوثناہ کرؤ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے قادر تیری قائنات قدرت کو دیکھ کر تیرے دیدار کا عاشق ہو گیا ہوں۔۔ میری مذہبی اور دنیاوی دولت تو ہی ہے ۔ اور تو اس سے بیلاگ ہے ۔ رہاؤ۔ اے خدا تو بکرم پیدا کرکے فناہ کر دیتا ہے ۔ عجیب و غریب ہے شکل وصورت تیری جو حیران انسان کو کر دیتی ہے ۔ کوئی انسان تیرے طریقے کار سمجھ نہیں سکتا اے خدا تو انسان کے لئے اندھیرے میں ایک چراغ ہے نور ہے روشنی ہے (1) اے اللہ تعالیٰی اے مہربان خدا۔ جس کو تیری پشت پناہی حاصل ہو جائے فرشتہ موت اسکا دوست بن جاتا ہے اسکے سارے گناہ معاف ہوجاتے ہیں بخشش دیئے جاتے ہیں۔ اور تیرے خدمتگار تیرا دیدار پاتے ہیں اے خدا (3) اے اللہ اے خدا تو ساری مخلوقات اور عالم کا خود ماک ہے جو تیری روز و شب عبادت وریاضت کرتا ہے اسے دوزخمیں جانا نہیں پڑتا ((2) دنیا کی تمام نعمتیں وقتی ہیں اور جلد ختم ہوجاتی ہیں۔ صدیوی آرام و آسائش تیرے نام حق سچ وحقیقت سے ہی حاصل ہوتا ہے ۔ اے نانک بتادے مرشد کے ملاپ سے یہ بات سمجھ آتی ہے کہ ہمیشہ واحدا خدا کی حمدوثناہ کیجیئے ۔

تِلنّگ مہلا ੫॥
میِراں داناں دِل سوچ ॥
مُہبتے منِ تنِ بسےَ سچُ ساہ بنّدیِ موچ ॥੧॥ رہاءُ ॥
دیِدنے دیِدار ساہِب کچھُ نہیِ اِس کا مولُ ॥
پاک پرۄدگارتوُکھُدِکھسمُۄڈااتولُ॥੧॥
دس٘تگیِریِدیہِدِلاۄرتوُہیِتوُہیِایک॥
کرتار کُدرتِ کرنھ کھالک نانک تیریِ ٹیک ॥੨॥੫॥
لفظی معنی :
میراں۔ سردار۔ داناں۔ دانشمند۔ با عقل و ہوش ۔ ول سوچ۔ دل میں سمجھ ۔ محبتے ۔ محبت سے ۔ من تن۔ دل وجان میں۔ لیتے ۔ بستا ہے ۔س چ ساہ ۔ صدیوی شاہو کار ۔ بندی موچ ۔ قیدو غلامی سے نجات دلانے والا (1) رہاؤ۔ دیدنے دیدا ر ساحب۔ سیدار خدا۔ مول۔ قیمت۔ پروردگار۔ پرورش کرنے والا۔ وڈاانلول۔ اتنا عطیم جسکا وزن نہ ہو سکے (1) دستگیر ۔ ہاتھ پکڑنے کا عمل۔ مراد۔ مکمل امداد۔ دلاور۔ مضبوط دل۔ مستقل مزاج۔ بحادر۔ کرتار۔ کارساز۔ قدرت ۔ طاقت ۔ کرتار۔ قدرت۔ کارساز قدرت ۔ خالق۔ مالک مخلوقات ۔ ٹیک ۔ آسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ہوشمند با شعور سردار دل میں سمجھ خیال کر اے سچے صدیوی شاہور کار نجات وہندہ غالمیوں سے نجات دلانے والے تیری محبت میری دل و جان میں بس گئی ہے اے خدا تیرا دیدار اتنا بیش قیمت ہے کہ (اسکا ) اسکی قیمت کا تعین نہیں ہو سکتا ۔ اے پاک و پائس پروردگار تو مالک اتنی عطیم ہستی کا مالک ہے جس کا وزن نہیں ہو سکتا ۔ اے بادل بہادر دستگیری کرنے والا امدادی واحد ہے اے نانک بتادے کہ کار ساز قائنات قدرت وخالق خلقت و مخلوقات مجھے تیرا ہی سہارا ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੧ گھرُ ੨
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
جِنِ کیِیا تِنِ دیکھِیا کِیا کہیِئےَ رے بھائیِ ॥
آپے جانھےَ کرے آپِ جِنِ ۄاڑیِہےَلائیِ॥੧॥
رائِسا پِیارے کا رائِسا جِتُ سدا سُکھُ ہوئیِ ॥ رہاءُ ॥
جِنِ رنّگِ کنّتُ ن راۄِیاساپچھورےتانھیِ॥
ہاتھ پچھوڑےَ سِرُ دھُنھےَ جب ریَنھِ ۄِہانھیِ॥੨॥
پچھوتاۄانامِلےَ جب چوُکیَگیِ ساریِ ॥
تا پھِرِ پِیارا راۄیِئےَجبآۄیَگیِۄاریِ॥੩॥
کنّتُ لیِیا سوہاگنھیِ مےَ تے ۄدھۄیِایہ॥
سے گُنھ مُجھےَ ن آۄنیِکےَجیِدوسُدھریہ॥੪॥
جِنیِ سکھیِ سہُ راۄِیاتِنپوُچھئُگیِجاۓ॥
پاءِ لگءُ بینتیِ کرءُ لیئُگیِ پنّتھُ بتاۓ॥੫॥
ہُکمُ پچھانھےَ نانکا بھءُ چنّدنُ لاۄےَ॥
گُنھ کامنھ کامنھِ کرےَ تءُ پِیارے کءُ پاۄےَ॥੬॥
جو دِلِ مِلِیا سُ مِلِ رہِیا مِلِیا کہیِئےَ رے سوئیِ ॥
جے بہُتیرا لوچیِئےَ باتیِ میلُ ن ہوئیِ ॥੭॥
دھاتُ مِلےَ پھُنِ دھاتُ کءُ لِۄلِۄےَکءُدھاۄےَ॥
گُر پرسادیِ جانھیِئےَ تءُ انبھءُ پاۄےَ॥੮॥
پانا ۄاڑیِہوءِگھرِکھرُ سار ن جانھےَ ॥
رسیِیا ہوۄےَمُسککا تب پھوُلُ پچھانھےَ ॥੯॥
اپِءُ پیِۄےَجونانکابھ٘رمُبھ٘رمِسماۄےَ॥
سہجے سہجے مِلِ رہےَ امرا پدُ پاۄےَ॥੧੦॥੧॥
لفظی معنی :
جن کیا۔ جس نے پیدا کیا ۔ تن دیکھیا۔ اس نے خبر گیری کی ۔ داڑی ۔ باغیچی ۔ (1) رسائسا۔ تاریخی کہانی ۔ جت۔ جس سے ۔ رہاؤ۔ جن رنگ کنت۔ نہ بھوگیا۔ جس نے خاوند کا لطف نہ لیا۔ مراد جس نے الہٰی پریم کا مزہ نہ لیا۔ پطھو رے تانی ۔ وہ پچھتاتا ہے ۔ رین وہانی ۔ جب رات گذر جاتی ہے ۔ مراد جب عمر یا زندگی ختم ہو گئی ۔ ہاتھ چھوڑے ۔ ہاتھ ملتا ہے ۔س ردھنے ۔ سر پھٹکتا ہے ۔ (2) چو گیگی ساری ۔ جب ساری گذر گئی (3) گنت یا۔ خاوند پائیا۔ مراد الہٰی ملاپ پائیا۔ سوہاگنی ۔ خوش قیمت۔ خاوند پرست ۔ مراد خدا پرست۔ بدھوری ۔ مجھ سے بہتر۔ گن ۔ وصف۔ کے جی ۔ کس پر ۔ دوس۔ الزام (4) جنی سکھی ۔ جن ساتھیوں نے ۔ سوہ راویا۔ ریاضت الہٰی کی ۔ پائے لگو۔ پاؤں پڑو۔ بنتی کرؤ ۔ عرض گذارو۔ پنتھ ۔ راستہ ۔ طریقہ (5) حکم پچھا نے ۔ الہٰی رضآ سمجھے ۔ بھؤ چندن لاوے ۔ خوف اور ادب کی چندن کی سی خوشبو ۔گ ن ۔ وصف۔ کامن۔ جادو۔ تعویز (4) جو دل ملیا۔ جو تہ دل سے ملتا ہے ۔ لو چیئے ۔ خواہش کریں۔ باقی ۔ زبانی کلامی (7) دھات ۔ مادیات ۔ مادہ۔ فن۔ دوبارہ۔ لو۔ محبت۔ دھاوے ۔ دوڑتی ہے ۔ گر پرسادی۔ رحمت مرشد سے ۔ ابھؤ۔ بیخوف (7) رسیا۔ لطف لینے والا ۔ مسک ۔ کستوری ۔ پانا واڑی ۔ پان کا باغ۔ خبر۔ گدھا۔ اپیؤ۔ آب حیات (9) بھرم بھرم۔ بھٹک بھٹک کر ۔ سہجے سہجے ۔ روحانی یا ذہنی سکون۔ امر اپد۔ صدیوی وہ رتبہ جہاں روحانی موت واقع نہیں ہوتی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی حمدوثناہ کرنے سے ہمیشہ سکون اور آرام و اسائش حاصل ہوتی ہے ۔ رہاؤ۔ جس نے یہ عالم پیدا کیا ہے ۔ نگراین بھی وہی ہے ۔ اسکی بابت کچھ بیان نہیں ہو سکتا۔ اسکے متعلق وہ جو دہی جانتا ہے جس نے یہ عالمی باغیچہ بنائیا ہے (1) جس نے نہیں پیار کیا خدا سے آفرو ہے ۔ سر دھنتا ہے اور پچھتاتا ہے (@) پچھتانے سے کیا ہوتا ہے جب عمر گذر جاتی ہے ۔ تب ہی حمدوثناہ ہو سکی گی ۔ جب دوبارہ انسانی زندگی میسر ہویگ (3) جنہیں حاصل ہوا وصل خدا کا مجھ سے ہیں بہتر وہ کیا الزام لگاوں ان پر مجھ میں ہیں وصف ان جیسے (4) جن کو وصل ہوا ہے حاصل ان سے جاکر پوچھو گا پاؤں پڑوں گا عرض گذارون گا اور طریقہ راستہ ان سے پوچھو ں گا وصل الہٰی (5) اے نانک۔ رضائے الہٰی کی کرنا پہچان جو چندن کی خوشبو لگانا ہے اور اسکا ادب و اداب ہی خوشبو ہے چندن کی ۔ جب اوصاف ہو خادم کید امن تو وصل الہٰی ملتا ہے (6) جو تہہ دل سے وصل الہٰی چاہتا ہے ۔ وہ وصل بھی پا لیتا ہے اور وہی وصل کہلاتا ہے ۔ خواہش ہو کتنی ہی زیادہ زانی باتوں سے وصل نہ پائیا جاتا ہے (7) جیسے دھات میں مل جاتی ہے ۔ ایسے ہی پیار کو پایرا چاہتا ہے ۔ رحمت مرشد سے عقل و سمجھ آتی ہے ۔ انسان کو تو وہ بیخوف خدا پا لیتا ہے (8) خواہ پانوں کا باغیچہ ہو گھر میں گدھے کو اسکی قدروقیمت کا پتہ نہیں چلتا۔ جسے خوشبو سے ہے محبت پہچان پھولوں کی اسے ہی ہوتی ہے (9) اے ناک آب حیات جو پیتا ہے اس کیتگ و دو اور بھٹکن ختم ہو جاتی ہے ۔ آسانی سے پر سکون وصل الہٰی پاتا ہے اور صدیوی زندگی کا روحانی درجہ پاتا ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੪॥
ہرِ کیِیا کتھا کہانھیِیا گُرِ میِتِ سُنھائیِیا ॥
بلِہاریِ گُر آپنھے گُر کءُ بلِ جائیِیا ॥੧॥
آءِ مِلُ گُرسِکھ آءِ مِلُ توُ میرے گُروُ کے پِیارے ॥ رہاءُ ॥
ہرِ کے گُنھ ہرِ بھاۄدےسےگُروُتےپاۓ॥
جِن گُر کا بھانھا منّنِیا تِن گھُمِ گھُمِ جاۓ॥੨॥
جِن ستِگُرُ پِیارا دیکھِیا تِن کءُ ہءُ ۄاریِ॥
جِن گُر کیِ کیِتیِ چاکریِ تِن سد بلِہاریِ ॥੩॥
ہرِ ہرِ تیرا نامُ ہےَ دُکھ میٹنھہارا ॥
گُر سیۄاتےپائیِئےَگُرمُکھِنِستارا॥੪॥
جو ہرِ نامُ دھِیائِدے تے جن پرۄانا॥
تِن ۄِٹہُ نانکُ ۄارِیاسداسداکُربانا॥੫॥
لفظی معنی
میت۔ دوست۔ بل ۔ قربان (1) گر سیکھ ۔ مرید مرشد۔ رہاؤ۔ ہر کے گن۔ الہٰی اوصاف۔ ہر بھاوے ۔ خدا کو پیارے ہیں ۔ سے گروتے پائے ۔ بھانا۔ رضا۔ گھم گھم۔ قربان (2) ستگر ۔ سچا مرشد۔ چاکری ۔ خدمتگاری (3) ترا نام ۔ سچ حق وحقیقت ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ نستارا۔ کامیابی (4) پروانا۔ مقبو۔ وٹہو۔ ان پر۔
ترجمہ معہ تشریح
اے مرید مرشد ضڑور مل ۔ رہاؤ۔ مرشد دوست نے الہٰیکہانیاں اور خدا کے بارے باتیں سنائیں ۔ میں اپنے مرشد پر قربان ہوں (1) الہٰی اوصاف خدا کو پیارے ہیں جو مرشد سے ملتے ہیں جن کا پتہ اور خبر مرشد سے ملتی ہے ۔ جو رضائے مرشد میں راضی رہتا ہے قربان ہوں اس پر (3) جس نے پیارے سچے مرشد کا ددیار کیا ہے قربان ہوں اس پر اور جس نے مرشدکی خدمتگاری کی ہے اس پر صدبار قربان ہوں (3) اے خدا تیرا نام سچ حق و حقیقت جو عذاب مٹانے وال اہے ۔ جو خدمت مرشد سے ملتا ہے اور مرشد کےو سیلے سے ہی کامیابی حاصل ہوتی ہے (4) جو الہٰی نام میں اپنا دھیان اور توجو دیتے ہیں وہ مقبول ہو جاتے ہیں۔ نانک ہمیشہ ہمیشہ ان پر قربان ہے (5)

سا ہرِ تیریِ اُستتِ ہےَ جو ہرِ پ٘ربھبھاۄےَ॥
جو گُرمُکھِ پِیارا سیۄدےتِنہرِپھلُپاۄےَ॥੬॥
جِنا ہرِ سیتیِ پِرہڑیِ تِنا جیِء پ٘ربھنالے॥
اوءِ جپِ جپِ پِیارا جیِۄدےہرِنامُسمالے ॥੭॥
جِن گُرمُکھِ پِیارا سیۄِیاتِنکءُگھُمِجائِیا॥
اوءِ آپِ چھُٹے پرۄارسِءُسبھُجگتُچھڈائِیا॥੮॥
گُرِ پِیارےَ ہرِ سیۄِیاگُرُدھنّنُگُرُدھنّنو॥
گُرِ ہرِ مارگُ دسِیا گُر پُنّنُ ۄڈپُنّنو॥੯॥
جو گُرسِکھ گُرُ سیۄدےسےپُنّنپرانھیِ॥
جنُ نانکُ تِن کءُ ۄارِیاسداسداکُربانھیِ॥੧੦॥
لفظی معنی
سا۔ وہی ۔ ہر پربھ۔ اے خدا۔ استت۔ تعریف۔ حمد۔ مرشد کے وسیلے سے ۔ سیووے ۔ خدمت کرتے ہیں۔ تن ہر پھل ۔ پاوے ۔ وہ خدا کی طرف سے کامیابی پاتے ہیں (6) پر ہٹری ۔ پریم پیار ۔ سیتی ۔ سے ۔ ساتھ۔ تناجی ۔ ان کے دل ۔ پرھ ناے ۔ خدا کے ساتھ ہیں۔ جیووے ۔ زندگی گذارتے ہیں۔ ہر نام سماے ۔ والہٰی نام میں محو ومجذوب رہتے ہیں (7) گھم قربان۔ چھٹے ۔ نجات حاصل کی ۔ آزادی پائی (8) دھن۔ شاباش۔ ہر مارگ۔ الہٰی راستہ ۔ پن۔ ثواب۔ و ڈپنو۔ عظیم ثواب (9) پن پرانی ۔ پاک انسان
ترجمہ معہ تشریح
(جیسا ) جیسی پسند ہے تیری اے خدا وہی حمدوثناہ ہے تیری جو مرشد کے وسیلے سے خدمت خدا کی کرتے ہیں وہ پھل پاتے ہیں (6) جن کی محبت ہوتی ہے خدا سے ان کے دل میں بستا ہے ۔ خدا سے اسی میں ہوتی ہے ان کی زندگی الہٰی ریاض سے الہٰی نام سچ ۔ حق و حقیقت سے روحانی زندگی پاتے ہیں (8) قربان ہوں ان لوگوں پر جو مرشد کے وسیلے سے یاد خدا کو کرتے ہیں وہ آپ اپنے اہل وعیال اور سارے عام کو نجات دلاتے ہیں (8) پیارے مرشد کے وسیلے سے خدمت خدا کیجاتی ہے ۔ شاباش مرشد کو قابل ستائش ہے مرشد جس کے وسیلے سے حمدوثناہ خدا کیکیجاتی ہے ۔ اس نے ہی الہٰی راہ پر ڈالا ہے ۔ یہ اسکا بھاری احسان ہے (9) جو مریدان مرشد خدمت مرشد کرتے ہیں۔ بلند قسمت ہیں وہ ۔ خدمتگار خدا نانک ان پر قربان ہے سدا قربان ۔

گُرمُکھِ سکھیِ سہیلیِیا سے آپِ ہرِ بھائیِیا ॥
ہرِ درگہ پیَنائیِیا ہرِ آپِ گلِ لائیِیا ॥੧੧॥
جو گُرمُکھِ نامُ دھِیائِدے تِن درسنُ دیِجےَ ॥
ہم تِن کے چرنھ پکھالدے دھوُڑِ گھولِ گھولِ پیِجےَ ॥੧੨॥
پان سُپاریِ کھاتیِیا مُکھِ بیِڑیِیا لائیِیا ॥
ہرِ ہرِ کدے ن چیتِئو جمِ پکڑِ چلائیِیا ॥੧੩॥
جِن ہرِ ناما ہرِ چیتِیا ہِردےَ اُرِ دھارے ॥
تِن جمُ نیڑِ ن آۄئیِگُرسِکھگُرپِیارے॥੧੪॥
ہرِ کا نامُ نِدھانُ ہےَ کوئیِ گُرمُکھِ جانھےَ ॥
نانک جِن ستِگُرُ بھیٹِیا رنّگِ رلیِیا مانھےَ ॥੧੫॥
لفظی معنی
گورمکھ ۔ مریدان مرشد ۔ سکھی سہلیا۔ ساتھی۔ بھائیا۔ پیار یا ۔ ہر در گیہہ۔ دربار الہٰی میں ۔ پہنائای خلقتیں۔ عنایت ہوئیں۔ مراد انکی عزت افزائی ۔ ۔ توقیر حاصل ہوئی ۔ گل لائیا۔ محبت کی (11) دھیائدے ۔ توجہ اور دھیان دیتے ہیں۔ درسن ۔ دیدار۔ چرن۔ پاؤں۔ پکھالدے ۔ صاف کرتے ہیں دہوتے ہیں (12) کھاتیا کھاتے ۔ مکھ بیڑیا۔ منہ میںپانکے بیڑے ۔ چیتؤ۔ یاد کیا۔ جسم۔ فرشتہ۔ موت (13) ہر دے اردھارے ۔ دلمیں بسائیں (14) ندھان۔ خزانہ ۔ گورمکھ جانے ۔مرشد کے وسیلے سے سمجھ آتی ہے یا مرید مرشد سمجھتا ہے ۔ ستگر بھیٹیا ۔ سچے مرشد کا ملاپ حاصل ہوا یا کیا ۔ رنگ ۔پریم ۔ رلیاں ۔ خوشیاں۔
ترجمہ معہ تشریح
مرید مرشد اور اس کے ساتھی خدا کو پیارے ہو جاتے ہیں انہیں الہٰی دربار میں خلقتیں بخشش ہوتی ہیں مراد عزت افزائی ہوتی ہے ۔ اور خدا ان سے پیار کرتا ہے (11) جو مرید مرشد ہوکر الہٰینام سچ وحقیقت میں دھیان لگاتے ہیں۔ ان کا دیدار عنایت کیجیئے خدا۔ ہم ان کے پاؤں دہوئیں اور دہول پیئیں (12) جو انسان پانی سپاری ککھاتے ہیں منہ میں پان کا بیڑا ہے مراد دنیاوی عیش و عشرت میں مشغول ہیں اور خدا یا نہیں اخرت موت مراد روحانی موت اپنی گرفت میں لے لیتی ہے (13) جنہوں نے الہٰی نام سچ وحقیقت دل میں بسائی ان مریدان مرشد اور مرشد کے پیاروں کے نزدیک نہیں پھٹکتی روحانی موت (14) الہٰی نام سچ وحقیقت ایک خزانہ ہے کوئی مرید مرشد کو ہی اسکی سمجھ ہے ۔ اے نانک بتادے کہ جنہیں وصلس چے مرشد کا حاصل ہو اور وہ روحانی سکون اور خوشی سے مخمور رہتے ہیں ۔

ستِگُرُ داتا آکھیِئےَ تُسِ کرے پسائو ॥
ہءُ گُر ۄِٹہُسدۄارِیاجِنِدِتڑانائو॥੧੬॥
سو دھنّنُ گُروُ ساباسِ ہےَ ہرِ دےءِ سنیہا ॥
ہءُ ۄیکھِۄیکھِگُروُۄِگسِیاگُرستِگُردیہا॥੧੭॥
گُر رسنا انّم٘رِتُبولدیِہرِنامِ سُہاۄیِ॥
جِن سُنھِ سِکھا گُرُ منّنِیا تِنا بھُکھ سبھ جاۄیِ॥੧੮॥
ہرِ کا مارگُ آکھیِئےَ کہُ کِتُ بِدھِ جائیِئےَ ॥
ہرِ ہرِ تیرا نامُ ہےَ ہرِ کھرچُ لےَ جائیِئےَ ॥੧੯॥
جِن گُرمُکھِ ہرِ آرادھِیا سے ساہ ۄڈدانھے॥
ہءُ ستِگُر کءُ سد ۄارِیاگُربچنِسمانھے॥੨੦॥
توُ ٹھاکُرُ توُ ساہِبو توُہےَ میرا میِرا ॥
تُدھُ بھاۄےَتیریِبنّدگیِتوُگُنھیِگہیِرا॥੨੧॥
آپے ہرِ اِک رنّگُ ہےَ آپے بہُ رنّگیِ ॥
جو تِسُ بھاۄےَنانکا سائیِ گل چنّگیِ ॥੨੨॥੨॥
لفظی معنی
داتا۔ سخی ۔ ٹس۔ خوش ہوکر ۔ پساد۔ رحمت ۔ مہرباین ۔ گروٹہو۔ مرشد پر (16) سنہیا ۔ پیغام۔ واعظ ۔ وگسیا۔ خوش ہوا۔ ستگر دیہا۔ سچے مرشد کے دیدار سے (17) رسنا۔ زبان۔ انمرت۔ آب حیات۔ وہ پانی جس کے پینے سے زندگی روحانی واخلاقی ہو جاتی ہے ۔ سہاوی ۔ اچھی ۔ جن سن سکھیا گرمنیا۔ جن مریدوں نے سنکر اس پر ایمان لے آئے ۔ بھکھ سب جاوی۔ ان کی خواہش ۔ تمنا مٹ گئی (17) مارگ ۔ راستہ۔ طریقہ ۔ کت بدھ۔ کس طور طریقے سے (19) اراھیا۔ دھیائیا۔ میں توجہ کی ۔ دھیان دیا۔ ساہ وڈوانے ۔ وہ بھاری شاہوکار اور دانمشند ہیں۔ داریا۔ قربان۔ گربچن۔ سمانے ۔کلام مرشد اپنا کر (20) تو ٹھاکر تو صاحبو۔ تو آقا ومالک ہے ۔ میرا ۔ سردار۔ تیری بندگی اداب و اطاعت ۔ گنی گیہہر۔ گہرے اوصاف والا (21) اک رنگ ۔ واحد ۔ بہور نگی ۔ بیشمار شکل صورتوں میں۔ بھاوے ۔ چاہتا ہے ۔ سائی ۔ وہی ۔
ترجمہ معہ تشریح
سچے مرشد کو ہی سخی کہنا چاہیئے جو خؤش ہوکر رحمت کرتا ہے میں قربان اس پر جو مہربان ہوکر الہٰی نام جو سچ صدیوی حق و حقیقت ہے بخشش کرتا ہے (16) وہ مرشد قابل ستائش ہے جو لوگوں کو الہٰی پیغام دیتا ہے میں اس مرشد کے ددیار سے خوشی محسوس کرتا ہوں خوش ہوں (17) مرشد کی زبان سے آب حیات جیسا شریں کلام نکالتا ہے جس سے زندگی کو روحانیت حاصل ہوتی اور الہٰی نام سچ حق وحقیقت سے سہاونی ہے ۔ جس مرید نے سنا اور اس پر ایمان لائیا اس کی دنیاوی بھوک مٹ گئی (18) اے (انسانوں ) خدا لہی راہ پر کیسے کس طریقے سےا س پر چل سکتے ہیں جو الہٰی راہ کہلاتا ہے ۔ اے خدا تیرا نام سچ حق و حقیقت ہی تو ہے اسی کو اس راستے کے بطور سفر خرچ ساتھ لیجاؤ ۔ اس طریقے سے ہی اس راستے پر چل سکتے ہیں (19) جنہوں نے مرید مرشد وہکر خدا میں اپنا دھیان لگائیا ۔ وہ بھاری دانشمند شاہو کار ہیں ۔ میں کلام مریشد میں محو ومجذوب ہوں اور سچے مرشد پر سو بار قربان ہوں (20) اے خدا تو میرا سردار آقا مالک ہے تجھے تیری اطاقت اور ادب آداب پیار ا ہے ۔ تو بھاری سنجیدہا وصاف کا مالک ہے (21) اے خدا تو واحد ہوتے ہوئے واحد ہستی ہونے کے باوجود بیشمار شکلوں صورتوں میں ہے ۔ اے نانک اچ اہے ہوی جو اچھا خدا سمجھتے ۔

تِلنّگ مہلا ੯ کاپھیِ
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
چیتنا ہےَ تءُ چیت لےَ نِسِ دِنِ مےَ پ٘رانیِ॥
چھِنُ چھِنُ ائُدھ بِہاتُ ہےَ پھوُٹےَ گھٹ جِءُ پانیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہرِ گُن کاہِ ن گاۄہیِموُرکھاگِیانا॥
جھوُٹھےَ لالچِ لاگِ کےَ نہِ مرنُ پچھانا ॥੧॥
اجہوُ کچھُ بِگرِئو نہیِ جو پ٘ربھگُنگاۄےَ॥
کہُ نانک تِہ بھجن تے نِربھےَ پدُ پاۄےَ॥੨॥੧॥
لفظی معنی
چتینا ۔ یاد کرنا ۔ نس دن۔ روز و شب۔ دن ۔ رات۔ پرانی ۔ اے انسان۔ چھن چھن۔ ہر لمحہ ہر گھڑی ۔ اؤدھ ۔ عمر۔ بہات ۔ گذر رہی ہے ۔ پھوٹے گھٹ۔ توٹے ہوئے گھڑ ے ۔ جیؤ پانی جیسے پانی (1) رہاؤ۔ ہرگن ۔ الہٰی حمد۔ کاہے ۔کیوں۔ مورکھ ۔ بیوقوف ۔ اگیانا بے علم ۔ مرن پچھانا ۔ موت کی پہچان (1) اجہو ۔ اب بھی ۔ ابھی ۔ بھجن۔ بندگی ۔ نربھے پد۔ بیخوفی کا رتبہ
ترجمہ معہ تشریح
اے انسان اگر تو خدا کی عبادت ریاضت ویاد کرنا چاہتا ہے تو روز و شب دن رات یاد کر ۔ کیونکہ عمر اس طرحس ے گذار رہی ہے اور کم ہو رہی ہے جس طڑح سے پھوٹے ہوئے گھڑے سے پانی نکل جاتا ہے اور گھڑا خالی ہوجاتا ہے (1) رہاؤ۔ اے بے علم نادان الہٰی صفت صلاح کیوں نہیں کرتا بیوقوف جھوٹے دنیاوی لا لچوں میں موت بھلا رکھی ہے (1) اب بھی کچھ نقصان نہیں ہو اگر تو الہٰی حمدوچناہ کرنے لگے کیونکہ اے نانک۔ الہٰی عبادت وریاضت و حمدوثناہ کی برکت سے بیخوفی کا رتبہ حاصل ہوتا ہے ۔

تِلنّگ مہلا ੯॥
جاگ لیہُ رے منا جاگ لیہُ کہا گاپھل سوئِیا ॥
جو تنُ اُپجِیا سنّگ ہیِ سو بھیِ سنّگِ ن ہوئِیا ॥੧॥ رہاءُ ॥
مات پِتا سُت بنّدھ جن ہِتُ جا سِءُ کیِنا ॥
جیِءُ چھوُٹِئو جب دیہ تے ڈارِ اگنِ مےَ دیِنا ॥੧॥
جیِۄت لءُ بِئُہارُ ہےَ جگ کءُ تُم جانءُ ॥
نانک ہرِ گُن گاءِ لےَ سبھ سُپھن سمانءُ ॥੨॥੨॥
لفظی معنی
جاگ لیہ ۔ بیدار ہو جاؤ۔ غافل ۔ سست۔ لا پرواہ ۔ سوئیا۔ غفلت کی نید سو رہا ہے ۔ تن جسم۔ سنگ۔ ساتھ۔ سنگ نہ ہوئیا۔ ساتھ نہیں جائیگا (1) رہاؤ۔ ست۔ بیٹا ۔ فرزند۔ بندھ ۔ رشہ دار ۔ تعلق یا واسطہ دار۔ ہت۔ پیار۔ جاسیؤ۔ جس سے ۔ کینا۔ کرتا ہے ۔ جیؤ ۔ روح ۔ چھٹیؤ۔ نکل جائیگی ۔ پرواز کر جائیگی ۔ دیہہ ۔ جسم۔ اگن۔ میں دینا۔ آگ میں ڈال دینگے (1) جیوت لیؤ بیوہار ہے ۔ زندگی تک ہی دنیاوی کام کاجا ہے ۔ تم جانؤ ۔ سمجھ لو۔ سب۔ سارا۔ سفن سمانؤ۔ سپنے جیسا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح
اے دل بیدار ہوکیوں غفلت میں سوہرہا ہے غافل ہو رہا ہے جو جسم تیرے ساتھ پیدا ہوا ہے وہ آخر ساتھ نہیں دیتا (1) رہاؤ۔ ماں باپ ۔ پیٹے رشتہد ار جن سے تو محبت کرتا ہے جب روح پرواز کر جاتی ہے اور جسم کو چھوڑ دیتی ہے تو اگ میں ڈال دیتے ہیں (1) اے نانک بتادے اس عالم کو اسطرح سمجھو کہ اسکا جب تک زندگی ہے اسو قت تک ہی اس سے رشتہ یا تعلق ہے درنہ یہ ایک خؤاب کی مانند ہے اس لئے جب تک زندہ ہو الہٰی حمد وثناہ کرؤ۔

. تِلنّگ مہلا ੯॥
ہرِ جسُ رے منا گاءِ لےَ جو سنّگیِ ہےَ تیرو ॥
ائُسرُ بیِتِئو جاتُ ہےَ کہِئو مان لےَ میرو ॥੧॥ رہاءُ ॥
سنّپتِ رتھ دھن راج سِءُ اتِ نیہُ لگائِئو ॥
کال پھاس جب گلِ پریِ سبھ بھئِئو پرائِئو ॥੧॥
جانِ بوُجھ کےَ باۄرےتےَکاجُبِگارِئو॥
پاپ کرت سُکچِئو نہیِ نہ گربُ نِۄارِئو॥੨॥
جِہ بِدھِ گُر اُپدیسِیا سو سُنُ رے بھائیِ ॥
نانک کہت پُکارِ کےَ گہُ پ٘ربھسرنائیِ॥੩॥੩॥
لفظی معنی
سنگی ۔ ساتھی ۔ اؤسر۔ موقعہ ۔ وقت گذر رہا ہے ۔ رہاؤ۔ سنپت۔ سامان ۔ رتھ ۔ سرمر دھن ۔ سرمایہ۔ دؤلت۔ راج ۔ حکومت۔ ینہو۔ محبت۔ کال پھاس۔ موت کا پھندہ۔ بھؤ پراہؤ۔ تو بیگانہ ہوجاتا ہے (1) جان بوجھ ۔ سوچتے سمجھتے ہوئے ۔ کاج ۔ کام ۔ پاپ ۔ گناہ۔ جرم۔ سکچیؤ۔ سوچیا نہیں شرم وجیا نہیں کی ۔ گربھ ۔ غرور ۔ تکبر۔ نواریؤ۔ مٹائیا (2) جیہہ بدھ۔ جس طریقے سے ۔ گراپدیسا۔ سبق دیا ہے ۔ نصیحت یا واعظ کی ہے ۔ پکار ۔ بلند آوا۔ گہہ۔ پکڑ ۔ اختیار کر۔ پربھ سرنائی۔ الہٰی پشت۔ پنہا۔
ترجمہ معہ تشریح
اے دل میرا کہا مان موقعہ ہاتھ سے جا رہا ہے الہٰی حمدوثناہ کر جو تیرا ساتھی ہے ساتھ دیگا ۔ رہاؤ۔ سامان عیش و عشرت جائدیاد و سرمایہ ۔ رتھ ۔ حکومت اور حکمرانی سے نہایت پیار کرتا ہے یہ جب موت آئایگی موت کا پھندہ گلے میں ہوگا ۔ سب دوسروں کا ہوجائیگا(1) اے پاگل انسان جانتے اور سوتے سمجھتے ہوئے اپنا کام وگاڑتے ہو ۔ گناہ ۔ جرم اور بدکاریاں کبھی حیا۔ لاج اور شرم نہیں آئی نہ غرور دل سے نکالا (2) نانک ب بلند آواز کہتا ہے ۔ اے انسان سبق مرشد غور سےس ن اور الہٰی پشت پناہی حاصل کر۔

تِلنّگ بانھیِ بھگتا کیِ کبیِر جیِ
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
بید کتیب اِپھترا بھائیِ دِل کا پھِکرُ ن جاءِ ॥
ٹُکُ دمُ کراریِ جءُ کرہُ ہاجِر ہجوُرِ کھُداءِ ॥੧॥
بنّدے کھوجُ دِل ہر روج نا پھِرُ پریسانیِ ماہِ ॥
اِہ جُ دُنیِیا سِہرُ میلا دستگیِریِ ناہِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
دروگُ پڑِ پڑِ کھُسیِ ہوءِ بیکھبر بادُ بکاہِ ॥
ہکُ سچُ کھالکُ کھلک مِیانے سِیام موُرتِ ناہِ ॥੨॥
اسمان پ਼م٘ز٘زانےلہنّگدریِیاگُسلکردنبوُد॥
کرِ پھکرُ دائِم لاءِ چسمے جہ تہا مئُجوُدُ ॥੩॥
الاہ پاکنّ پاک ہےَ سک کرءُ جے دوُسر ہوءِ ॥
کبیِر کرمُ کریِم کا اُہُ کرےَ جانےَ سوءِ ॥੪॥੧॥
لفظی معنی
بید ۔ وید۔ ہندوں کی مذہبی کتابیں ۔ چار وید ۔ کتب ۔ مغربی مذہبوں کی مذہبی کتایبں۔ توریت ۔ زبور ۔ انجیل۔ قرآن پاک ۔ افترا۔ بناوٹی ۔ نقلی ۔ دل کا فکر نہ جائے ۔ اس سے دلی تشویش دور نہیں ہوتی ۔ اٹک دم۔ تھوڑا سا۔ کراری ۔ یکسوئی ۔ ٹھہر کر سوچو۔ جؤ۔ اگر۔ جے ۔ حاضر ۔ حجور خدا نے ۔ تو خدا حاضرناظر ہر جگہ موجو دہے (1) بندے ۔ اے انسان۔ کھوج ۔ تلاش کر ۔ ٹٹول۔ دل ۔ قلب۔ نرپھر ۔ پریشنای ماہے ۔ تشویش اور فکر م یں نہ رہ ۔ صحر جادو۔ مراد حقیقت اور دکھاوے میں فرق۔ دستگیری ناہے ۔ اس سے کچھ مسیر نہیں ہوتا (1) رہاؤ۔ دروغ۔ جھوٹ۔ بیخبر۔ حقیقت نہ جاننے والا۔ نادان۔ باد۔ جھگڑا ۔ بکاہے ۔ بحث مباحثہ ۔ حق ۔ اصلیت۔ سچ ۔ صڈیوی حقیقت ۔ خالق۔ پیدا کرنے والا۔ خدا ۔ خلق میانے ۔ خلقت میں اسکی پیدا کی ہوئی مخلوقات میں ہے ۔ سیام مورت ناہے ۔ کرشن کی مورتی میں نہیں ہے (2) اسمان۔ ذہن ۔ دماگ۔ جہاں سوچنے اور سمجھنے کی طاقت کیجگہ یا قوت موجود ہے ۔ لہنگ دریا الہٰی دریا بہتا ہے ۔ غسل کرون بود۔ گصل۔ اشنان ۔ کردن کرنا۔ بود۔ تھا۔ فکر۔ فقیری ۔ عبادت و اطاعت والی زندگی ۔ دائم ۔ ہشمیہ۔ لائے چشمے ۔ غور بھری آنکھوں یعنی عینک لگا کر۔ مگر امید ہے اسوقت عین ایجاد نہ ہوگی ۔ لہذا بغور تمام ۔ جیہہ۔ تہا موجود۔ ہر جگہ موجود ہے (3) اللہ ۔ خدا۔ پاک ۔ پاک ۔ نہایت پاک ۔ یعنی پاک سے بھی زیادہ پاک ۔ شک شبہ ۔ دوسر۔ اسکے علاوہ کوئی دیگر مراد واحد ہے اور اسکا کوئی ثانی موجود نہیں۔ کرم ۔ اعمال۔ بخشش ۔ کریم ۔ اعمال۔ اور بخشش کرنے والا۔ وہ ۔ وہی ۔ خدا ۔ کرے جانے سوئے ۔ یا نو کرنےو الا یا جس پر ہودہی جانتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح
اے دوستوں۔ ہندوں کے ویدوں اور مغربی مذہبی کتابوں توریت ۔ زبور۔ انجیل و قران کے بحث مباحثوں میں پڑ کر دل کا خوف اور تشویش ختم نہیں ہوتی ۔ اگر زرا پر سکون اور یکسو ہرک سوچو تو سب میں الہٰی جھلک اور نور الہٰی دکھائی دیگا (1) اے انسان اپنے دل کی تحقیق کر دل ٹٹول ہر روز گھبراہٹ اور تشویش میں نہ رہ یہ دنیا یہ علام ایک جادور گیر کا کھیل یا تماشا ہے اسکے ظاہر و باطن میں فرق ہے اسمیں کوئی امدادی یا د ستگیر نہیں۔ر ہاؤ۔ جھوٹے جوھٹ پڑ ھ پڑھ کر خوش ہوکر بحثت مباحثے کرتے ہیں وہ حقیقت سے ۔ بیخبر جھگڑتے بخشش کرتے ہیں۔ صدیوی خدا خالق جس نے عالم پیدا کیا ہے اپنی خلقت اور مخلوقات میں بستا ہے نہ کہ سیام یعنی کرشن کی پتھر کی مورتی میں بستا ہے یا کرشنی کی مورتی خدا ہے (2) خدا انساین ذہن میں دریا میں لہروں ی مانند بلوے اُٹھ رہے ہیں ۔ اے انسان تجھے اسمیں غسل کرنا چاہیے تھا ہمیشہ مفکرانہ زندگی بسر کر اور غرور و خوص سے اور دور اندیشی کا چشمہ لگا کر دیکھ جہاں کہاں ہر جگہ خدا بستا نظر آئیگا ۔ (3) اللہ پاک و پائس ہستی ہے شک تو تب ہو سکتا ہے اگر اسکے علاوہ کوئی دوسری ہستی ہو ۔ اے کبیر۔ جس پر ایمان و مشفق کی کرم و عنایت ہو اور وہ کرے وہی اسے سمجھ سکتا ہے ۔

نامدیۄجیِ॥
مےَ انّدھُلے کیِ ٹیک تیرا نامُ کھُنّدکارا ॥
مےَ گریِب مےَ مسکیِن تیرا نامُ ہےَ ادھارا ॥੧॥ رہاءُ ॥
کریِماں رہیِماں الاہ توُ گنیِ ॥
ہاجرا ہجوُرِ درِ پیسِ توُنّ منیِ ॥੧॥
دریِیاءُ توُ دِہنّد توُ بِسیِیار توُ دھنیِ ॥
دیہِ لیہِ ایکُ توُنّ دِگر کو نہیِ ॥੨॥
توُنّ داناں توُنّ بیِناں مےَ بیِچارُ کِیا کریِ ॥
نامے چے سُیامیِ بکھسنّد توُنّ ہریِ ॥੩॥੧॥੨॥
لفظی معنی
اندھلے ۔ اندھے ۔ ذہنی نابینے ۔ ٹیک۔ آسرا۔ کھنڈ کا را۔ سہارا ۔ مسکین ۔ عاجز۔ لاچا۔ مجبور۔ ادھارا۔ آسرا (1) رہاؤ۔ کریما ۔ اے کرم وعنایت کرنے والا۔ بخشنہارا۔ رحیما۔ رحیم یا ترس کرنے والے اللہ خدا۔ غنی ۔ امیر۔ دولتمند۔ درپیس۔ ساہمنے ۔ منی میرے (!) دریاؤ۔ سمندر ۔ دہند ۔ دینے والا۔ بسیار۔ بہت زیادہ۔دھنی ۔ مالک ۔ دولتمند۔ دیہہ لیہہ۔ دینے اور لینے والا۔ دگر ۔ دیگر ۔ دوسرا (2) دانا۔ چاہنے والا ۔ دانشمند ۔ بینا ۔ دور اندیش وچار کیا کری ۔ اس کی بابت ۔ سوچا سمجھا جائے ۔ نامے چہ سوامی ۔ اے نامدیو کے مالک۔ بخسند۔ بخشنے والا۔ ہری ۔خدا۔
ترجمہ معہ تشریح
اے میرے شنہشا تیرا نام مجھ اندھے کے لئے اندھے کی ڈنگوری ہے ۔ میں کنگال بلا سرامیہ عاجز ومجبور ہوں تیرا نام ہی مریا واحد سہارا ۔ آسرا اور ذریعہ ہے (1) رہاؤ۔ اے اللہ قادرو کریم و رحیم تو ہر طرحسے امیر تو ہر جگہ حاضر ناطر ہے ۔ سہامنے ہے تو ایک نور ہے روشنی ہے (1) تو ایک سمندر کی مانند وسیع ہے تو دینے والا سخی داتا ہے ۔ تو بیشمار دولتمند ہے تو سب کو دینے والاا ورلینے والا ہے ۔ ایک لو ہی ہے تیر علاہو تیرا کوئی ثانی نہین (2) اے نامدیو کے مالک وآقا۔ تو بخشش کرنے والا ہے ۔ تو دامنشد ہے دورا ندیش ہے میں تیرے بارے کیا خیال آرائی کرؤں سوچو یا سمجھوں ۔

ہلے زاراں ہلے زاراں کھُسِکھبریِ ॥
بلِ بلِ جاںءُ ہءُ بلِ بلِ جاںءُ ॥
نیِکیِ تیریِ بِگاریِ آلے تیرا ناءُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کُجا آمد کُجا رپھتیِ کُجا مے رۄیِ॥
د٘ۄارِکانگریِراسِبُگوئیِ॥੧॥
کھوُبُ تیریِ پگریِ میِٹھے تیرے بول ॥
د٘ۄارِکانگریِکاہےکےمگول॥੨॥
چنّدیِ ہجار آلم ایکل کھاناں ॥
ہم چِنیِ پاتِساہ ساںۄلےبرناں॥੩॥
اسپتِ گجپتِ نرہ نرِنّد ॥
نامے کے س٘ۄامیِمیِرمُکنّد॥੪॥੨॥੩॥
لفظی معنی
اے دوست اپنے خیروعافیت کے بارے بتائیں۔ہلے یاراں۔ اے دوست۔ خوش خبری ۔ خیر و عافیت ۔ بل بل جاوں۔ قربان جاؤں۔ نیکی ۔ اچھی ۔ بیگار ی ۔ مفت ۔ بلا اجرت کام۔ اعلے ۔ بلند رتبے والا۔ ناؤں۔ نام (1) رہاؤ۔ کجا آمد۔ کہاں سے آئیا ہے ۔ کجا رفتی ۔ کہاں تو جائیگا۔ مے روی ۔ جا رہا ہے ۔ دوار کانگری ۔ دوار کا شہر۔ راس بگوئی ۔ سچ کہہ یا بنتا (1) خوب تیری پگری ۔ تیری پگڑی نہایت عمدہ ہے ۔ میٹے تیرے بول۔ تو شیریں زبان ہے ۔ کاہے کے منگول۔ تو کونسا مغل ہے (2) چندی ہزار عالم ۔ ہزاروں علاموں ۔ ایکل خاناں۔ واحد مالک ۔ ۔ چتی ۔ چنیں۔ کس طرح۔ سانوے ۔ کالے ۔ برناں۔ رنگ والے (3) اسپت۔ گھوروں کے مالک۔ اگجپت۔ ہاتھوں کے مالک۔ نریہہ نرند۔ انسانوںکا بادشاہ ۔ میر مکند۔ نجات وہندہ ۔ آزادی دلانے والا۔
ترجمہ معہ تشریح
اے دوست اپنی خیروعافیت کے بارے کہوں اور بتاو ۔ قربان ہوں صدقے ہوں تجھ پر کتنا نیک اور اچھی ہے بلا اجرت بطور رہیا تیری کار ۔ اور کتنی شہرت یافتہ مشہور ہے تیرا نام (1) رہاؤ۔ کہاں سے آئے ہو گیاں جاؤں گے کہاں جا رہے ہوں۔ یہ شہر دوآر کا ہے سچ سچ بتاؤ (1) خوب صورت پگڑی ہے اور شیریں زبان ہے تو دوآر کا شہر میں مغل کیے ہو سکتا ہے (2) ہزاروں عالموں کا واحد مالک ہے ۔ تو سیاہ فام بادشاہ کیسے ہے (3) تو گھوڑوں اور ہاتھیوں کا مالک ہے انسانوں پر تیری حکمرانی ہے ۔ اے نامے کے آقا تو نجات دہندہ حکمران ہے ۔

ستِنامُ کرتا پُرکھُ نِربھءُ نِرۄیَرُاکالموُرتِاجوُنیِ سیَبھنّ گُرپ٘رسادِ॥
راگُ سوُہیِ مہلا ੧ چئُپدے گھرُ ੧
بھاںڈا دھوءِ بیَسِ دھوُپُ دیۄہُتءُدوُدھےَکءُجاۄہُ॥
دوُدھُ کرم پھُنِ سُرتِ سمائِنھُ ہوءِ نِراس جماۄہُ॥੧॥
جپہُ ت ایکو ناما ॥
اۄرِنِراپھلکاما॥੧॥ رہاءُ ॥
اِہُ منُ ایِٹیِ ہاتھِ کرہُ پھُنِ نیت٘رءُنیِدنآۄےَ॥
رسنا نامُ جپہُ تب متھیِئےَ اِن بِدھِ انّم٘رِتُپاۄہُ॥੨॥
منُ سنّپٹُ جِتُ ست سرِ ناۄنھُبھاۄنپاتیِ ت٘رِپتِکرے॥
پوُجا پ٘رانھسیۄکُجےسیۄےاِن٘ہ٘ہبِدھِساہِبُرۄتُرہےَ॥੩॥
کہدے کہہِ کہے کہِ جاۄہِتُمسرِاۄرُنکوئیِ॥
بھگتِ ہیِنھُ نانکُ جنُ جنّپےَ ہءُ سالاہیِ سچا سوئیِ ॥੪॥੧॥
لفظی معنی
بھانڈہ۔ برتن۔ دہوئے ۔ دہوکر صاف کرکے ۔ دہوپ دیو ہو۔ دہوپ میں سکھاؤ۔ تؤ دہو دیہہ گؤ جاوہو۔ تب دود دہونے کے لئے قابل ہوتا ہے ۔ کرم ۔ اعمال۔ روزمرہ کا کام۔ سرت۔ ہوش۔ سمائ ۔ جاگ یا بیدایر ۔ نراس۔ نا اُمید ۔ جمادہو ۔ زیر کار لاؤ (1) جپہو۔ ریاض کیجیئے ۔ ایکو ناما۔ واحد الہٰینام۔ سچ حق وحقیقت۔ نرافل۔ بغیر پھل۔ بیکار (1) رہاؤ۔ ایہہ من ۔ اس دل کو ۔ ایٹی ہاتھ ۔ ہاتھ پکڑنے ولای ڈھینڈی ۔ فن ۔ بعد میں۔ نیند ۔ غفلت۔ سستی ۔ رسنا۔ زبان۔ نام جپہو۔ سچ ۔ حق وحقیقت دلمیں بساؤ۔ متھیئے ۔ اسطرح سے رڑکو ۔ مراد جہد کیجیئے ۔ ان اس طریقے سے ۔ انمرت پاوہؤ۔ اس طرح سے آب حیات یا مکھن حاصل ہوتا ہے ۔ سنپٹ ڈبہ ۔ ست سر ۔ سات سمندر ۔ ناون۔ اشنان۔ گصل۔ بھاون۔ ایمان۔ یقین ۔ پانی ۔ پتے ۔ ترپت۔ خوشنودی۔ پوجا ۔ پرستش۔ پران۔ زندگی ۔ سیوک ۔ خدمتگار خادم۔ سیوے ۔ خدمت کرے ۔ ان بدھ ۔ ان طریقے سے ۔ مراد اس طرح خودی وخود پسندی چھوڑے ۔ روت رہے ۔ اس طرح سے رابطہ بنائے (3) کہدے کہے ۔ کہنے والے کہتے ہیں۔ کہے کہہ جاوے ۔ کہتے کہتے چ لے جاتے ہیں۔ تم سر۔ نیرے جیسا۔ تیرا ثانی ۔ تیرے برابر۔ اور ۔ اور ۔ دیگر۔ بھگت ہین۔ پریم پیار سے خالی ۔ جن جنپے ۔ خادم عرض گذارتا ہے ۔ ہوں صالاحی میں ستائش کرتا ہوں ۔ صفت صلاح یا حمدوثناہ کرتا ہوں ۔ سچا سوئی۔ اس صدیوی سچے کی ۔
ترجمہ معہ تشریح
صرف خدا واحد کی حمدوثناہ کرؤ دوسرے تمام کا بیسود اور بیکار ہیں۔ رہاؤ۔ برتن دہوکر صاف کرکے دہوپ سکھا کر دہوپ دیکر تب دودھ دیونے کے لئے جاتے ہو ۔ لہذا روز مرہ کا کام اس دودھ کی مانند ہے الہٰی نام سچ حق و حقیقت میں اپنے آپ کو منسوب کرنا اس دودھ میں جاگ لگانا ہے ۔ا ور بلا غرض و عائت کسی غرض کو مد نظر نہ رکھ کر ۔ اس من کو نیترے یا دودھ رڑکنے والے رسے کی ڈھنڈیب ناو۔ زبان سے الہٰیع بادت ور یاضت کرنا اسے دودھ کا رڑ کنا ہے ۔ س طرح سے انسان کا رابطہ خدا سے رہتا ہے اور آب حیات مراد روحانی واخلاقی زندیگ حاصل ہوتی ہے (2)اس من کو ایک پجاری کے ڈبے جیسا بناو جس میں پجاری مورتی بند رکھت اہے ۔ جس کی توفیق سے سات سمندروں کا شنان یا غسل ایمان اور یقین اور پنوں کے چڑھاوے سے اس کی خوشنودی حاصل کرے اور خودی و خود پسندی چھوڑ کر خدمت کرے اس طرحسے انسان کا ملاپ و رابطہ خدا سے ہمیشہ کے لئے بنا رہتا ہے (3) کہنے والے کہتے اس عالم سے رخصت ہوجاتے ہیں ۔ اے نانک۔ الہٰی پریم پیار سے خالی منکر انسان عرض گذارتا ہے کہ میں اس ہمیشہ صدیوی سچے خدا کی حمدوثناہ کرتاہوں۔
مددعا ومطلب و خلاصہ :
مندرجہ بالا شبد و کلام دو مثالیں یا تشبیحات دی گئی ہیں اول دودھ کی دودھ صاف ستھرے برتن میں ڈالا جاتا ہے ۔ مراد قلب کی صفائی بغیر روحانیت اور الہٰی ملاپ ناپاک قلب میں نہیں سماتا اور اسکے لئے جیسے دودھ جمایا جاتا ہے اور رڑکنے بعد مکھن حاصل ہوتا ہے اس طرح سے جہدوریاضٹ اور سچ وحقیقت و حق اپنائے بغیر جس طرح مکھن حاصل نہیں ہوتا اسی طرح روحانی واخلاقی زندگی الہٰی خوشنودی وملاپ حاصل نہیں ہوتا ۔
دوئم۔ آپ نے پجاری کے مورتی رکھنےو الے ڈبے کید یتی ہوئے فرمایا۔ کہ جس طرح پجاری اپنی مورتی کا غسل کراتا ہے دہوپ دیتا ہےا ور پھولوں اور پتوں کا چڑھاوا پیش کرتا ہے اس طرح اےا نسان اس من کو میں الہٰی نام بسا اور اس نام کے ذریعے نیک پاکیزہ پارساؤں کی صحبت و قربت اختیار کر ایمان و یقین سے خدا کی خوشنودی حاصل کر اور خدمت یاد ویاض سے انسان کو صدیوی رابطہ و لاپ و خوشنوی حاصل رہتی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧ گھرُ ੨
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
انّترِ ۄسےَنباہرِجاءِ॥
انّم٘رِتُچھوڈِکاہےبِکھُکھاءِ॥੧॥
ایَسا گِیانُ جپہُ من میرے ॥
ہوۄہُچاکرساچےکیرے॥੧॥ رہاءُ ॥
گِیانُ دھِیانُ سبھُ کوئیِ رۄےَ॥
باںدھنِ باںدھِیا سبھُ جگُ بھۄےَ॥੨॥
سیۄاکرےسُچاکرُہوءِ॥
جلِ تھلِ مہیِئلِ رۄِرہِیاسوءِ॥੩॥
ہم نہیِ چنّگے بُرا نہیِ کوءِ ॥
پ٘رنھۄتِنانکُتارےسوءِ॥੪॥੧॥੨॥
لفظی معنی
انترو سے ۔ خدا دل میں بستا ہے ۔ انمرت ۔ آب حیات۔ وکھ ۔ زہر (1) گیان۔ علم ۔ جیہو۔ ریاض کر۔ ہو دہو ۔ ہوجاؤ۔ چاکر۔ خدمتگار ۔ سچے کیرے ۔ سچے خدا کی (1) رہاؤ۔ گیان ۔ دھیان۔ علم و توجہی ۔ روے ۔ مشغول ہے ۔ باندھن۔ بندھا ہوا۔ غلامی میں۔ جگ ۔ جہان ۔ دنیا۔ بھوے ۔ بھٹکتا ہے (2) سیو۔ خدمت۔ چاکر۔ خدمتگار۔ جل۔ پانی مراد۔ سمندر۔ تھل۔ زمین ۔ مہئیل۔ آسمان۔ خلا۔ پولاڑ (3) چنگے ۔ نیک ۔ پارسا۔ برا۔ بد۔ پرنوت۔ عرض۔ سوئے ۔ وہی ۔
ترجمہ معہ تشریح
ایسا علم و دانائی اختیار کر کہ تو الہٰی خدمت گار ہو جائے (1) رہاؤ۔ خدا دل میں بستا اے انسان باہر تلاش نہ کر ۔ اب حیات چھوڑ کر جس سے زندگی روحانی واخلاقی بنتی ہے دنیاوی نعمتوں کا مزہ نہ لے جو ایک زہر ہے کیوں کھاتا ہے (1) دانشمندی علم توجہ اور دھیان تو سب لگاتے ہیں مگر دنیاوی غلامی میں سارا عالم بھٹکتا پھر رہتا ہے (2) جو خدمت کرتا ہے وہی خدمتگار بنتا ہے ۔ زمین ۔آسمان خلا اور سمندر ہر جابستا ہے (3) اے نانک۔ جو انسان اپنے آپ پر مگرور نہیں اپنے کو نیک ہونے کا غرور نہیں کرتا اور دوسروں کو برا نہیں کہتا اور سمجھتا گذارش ہے کہ ایسےا نسان کو کامیابی عنایت کرتاہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧ گھرُ ੬
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
اُجلُ کیَہا چِلکنھا گھوٹِم کالڑیِ مسُ ॥
دھوتِیا جوُٹھِ ن اُترےَ جے سءُ دھوۄاتِسُ॥੧॥
سجنھ سیئیِ نالِ مےَ چلدِیا نالِ چلنّن٘ہ٘ہِ॥
جِتھےَ لیکھا منّگیِئےَ تِتھےَ کھڑے دِسنّنِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کوٹھے منّڈپ ماڑیِیا پاسہُ چِتۄیِیاہا॥
ڈھٹھیِیا کنّمِ ن آۄن٘ہ٘ہیِۄِچہُسکھنھیِیاہا॥੨॥
بگا بگے کپڑے تیِرتھ منّجھِ ۄسنّن٘ہ٘ہِ॥
گھُٹِ گھُٹِ جیِیا کھاۄنھےبگےناکہیِئن٘ہ٘ہِ॥੩॥
سِنّمل رُکھُ سریِرُ مےَ میَجن دیکھِ بھُلنّن٘ہ٘ہِ॥
سے پھل کنّمِ ن آۄن٘ہ٘ہیِتے گُنھ مےَ تنِ ہنّن٘ہ٘ہِ॥੪॥
انّدھُلےَ بھارُ اُٹھائِیا ڈوُگر ۄاٹبہُتُ॥
اکھیِ لوڑیِ نا لہا ہءُ چڑِ لنّگھا کِتُ ॥੫॥
چاکریِیا چنّگِیائیِیا اۄرسِیانھپکِتُ ॥
نانک نامُ سمالِ توُنّ بدھا چھُٹہِ جِتُ ॥੬॥੧॥੩॥
لفظی معنی
اجل۔ صاب۔ کیہا۔ کانسی کی دھات۔ چلکنا۔ چمکدار ۔ آبدار ۔ گھوٹم۔ رگڑنے سے ۔ کالی مس۔ کالخ۔ساہی دیتا ہے ۔ دہوتیا ۔ دہونے سے ۔ جوٹھ ۔ ناپاکیزگی ۔ اترے دور نہیں ہوتی (1) سجن۔ دوست۔ سیئی ۔ وہی ۔ چلدیا نال چلن ۔ ساتھ دیں۔ لیکھا ۔ حساب (1) رہاؤ۔ منڈپ۔ شامیانے ۔ ماڑیا۔ محلات۔ پاسہو چتوباہ۔ جن پر چیز کاری کی ہوئی ۔ ڈھٹھیاں۔ مسمار ہو جانے پر۔ وچہو۔ اندروں ۔ سکھنیاں۔ خالی (2) بگا۔ بگلے ۔ بگے کپڑے ۔ سفید پوش۔ تیرتھ ۔زیارت گاہ ۔ منجھ ۔ میں ۔ دسن۔ بستے ہیں۔ گھٹ گھٹ ۔ ظلم و ستم سے ۔ کھاونے ۔ کھانے والے ۔ کہئین ۔ کہلا سکتے (3) سمل رخ ۔ سنبل کے درخت جیسا۔ میجن۔ طوطے ۔ بھکن ۔ بھول جاتے ہیں۔ سے پھل ۔ وہ پھل۔ میں تن ہن ۔ وہی میرا جسم ہے (4) اندھلے ۔ اندھے ۔ نابینا۔ ڈوگر واٹ۔ پہاڑی دشوار گذار راستہ ۔ اکھی لوڑی ۔ آنکھوں کی ضرورت ہے ۔ نہ کہا۔ نہیں مل سکتا ۔ ہؤ چڑھ لنگھاکٹ۔ تو کیسے چڑھ کر پار ہونگا (5) چاکریاں خدمتیں۔ چنگیائیاں۔ نیکیاں اور اچھائیاں اور سیانپ دانمشند یاں۔ کت ۔ کیا۔ نام سمال۔ الہٰی نام ۔ سچ حق وحقیقت اپنا۔ بدھا چھٹے جت۔ جس سے غلامی میں گرفتاری سے نجات حاصل ہو۔
ترجمہ معہ تشریح
کینہ یا کانسی کا صف چمکدار برتن گھسانے سے کالخ دیتا ہے ۔ اگر اسے سوبار میںد ہوئیا کیوں نہ جائے اس کی اندروین کالخ یا سیاہی دور نہیں ہوتی (1) یہی حال انسانی من کا ہے حقیقی دوست وہی ہے جو ہر وقت ساتھ دے ۔ جہاں کہیں اور جب اعملا کا حساب ہو تو ساتھی اور امدادی ہو (1) رہاؤ۔ مکانات محالت جنپر چتر کاری کی ہوئی ہو گر جانے پر کسی کام نہیں آتے ۔ مراد یہی حال انساین زندگی اور جسم کا ہے ۔ جبکہ وہ اندرونی طور پر اوصاف سے خالی ہے (2) جس طرح سے بگلے جنکے پر سفید ہوتے ہیں اور زیارگت گاہوں یا مقدس مقامات پر رہنے والے بغیر پرہیز گاری اور نیک دلوں کے ان سفید پوش بگلوں کی ماند ہیں (3) سنبل کا درخت جیسا ہی یہ انسانی جسم ہے جسے دیکھر کر طوطے بھول جاتے ہیں ان کے پھلوں کو دیکھ کر مگروہ پھل کام نہیں اتے یہی حاسل اس انساین جسم کا ہے (4) راستہ پہاڑی اور دشوار گذار ہے اندھلے بھار اُٹھایا آنکھوں سے دکھائی نہیں دیتا تو ہو منزل مقصول تک کیسے پہنچے گا (5) مراد انسان بغیر ہوشمند ی عقل و دانائی کے زندگی کے راستے کی ذمہ داریاں اور فرائض جو اس پر ائعد ہیں کیسے پوریاں کریگا او رمنزل مقصول پر کس طرح پر پہنچے گا (5) اے نانک۔ خدمتگاریاں دنائایاں اور نیکیاں کسی کام نہیں آتیں الہٰی نام سچ حقیقت دل میں بسا جس کی توفیق ان دنایوی بندھوں اور غلامی سےنجات حاصل ہو ۔ توفیق ان دنیاوی بندھنوں اور غلامی سےنجات حاصل ہو مراد۔بیرونی دکھاوے بیکار نہیں جب تک دل پاک نہ ہو۔ سچ حق اور حقیقت سے ہی دنیاوی غلامی سے نجات حاصل ہوسکتی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧॥
جپ تپ کا بنّدھُ بیڑُلا جِتُ لنّگھہِ ۄہیلا॥
نا سرۄرُنااوُچھلےَایَساپنّتھُسُہیلا॥੧॥
تیرا ایکو نامُ منّجیِٹھڑا رتا میرا چولا سد رنّگ ڈھولا ॥੧॥ رہاءُ ॥
ساجن چلے پِیارِیا کِءُ میلا ہوئیِ ॥
جے گُنھ ہوۄہِگنّٹھڑیِئےَمیلیگاسوئیِ॥੨॥
مِلِیا ہوءِ ن ۄیِچھُڑےَجےمِلِیاہوئیِ॥
آۄاگئُنھُنِۄارِیاہےَساچاسوئیِ॥੩॥
ہئُمےَ مارِ نِۄارِیاسیِتاہےَچولا॥
گُر بچنیِ پھلُ پائِیا سہ کے انّم٘رِتبولا॥੪॥
نانکُ کہےَ سہیلیِہو سہُ کھرا پِیارا ॥
ہم سہ کیریِیا داسیِیا ساچا کھسمُ ہمارا ॥੫॥੨॥੪॥
لفظی معنی:
جپ ۔ ریاضت۔ تپ۔ تپسیا۔ عبادت۔ بندگی و اطاعت ۔ بندھ بیڑالا۔ بیڑا یا جاہز۔ لنگھیہہ۔ جس سے پار ہوئے ۔ دہیلا ۔ جلدی ۔ وقت ۔ (نہ سمندر) نہ سرور ۔ نہ اچھلے ۔ لہریں۔ اھیتں گی ۔ پتنھ سہیلا۔ راستہ آسامن ہوجائیگا (1) ایکو نام۔ واحد نام۔ مجیٹھڑا۔ پختہ ۔ پریم ۔ رتا میرا چولا۔ جس سے میرا انسانی جسم کو پریم ہوگیا۔ ڈہولا ۔ پیار دوست (1) رہاؤ۔ گن ہووے گنٹھڑی ۔ اگر وصف ہوں دامن (2) وچھڑے ۔ جدا نہیں ہوتا۔ آواگون ۔ تناسخ۔ نواریا۔ مٹائیا۔ ساچا سوئی۔ سڈیوی سچا خدا وہی ۔ ہونمے مار۔ خؤدی ختم کرکے ۔ سیتا ہے چولا۔ قمیض۔ سلا ہے ۔ مراد خویشتا بے عر ض و غائب حق سچ وحقیقت پر مبنی بنائیا ہے ۔ گربچن ۔ کلام مرشد ۔ سبق و نصائض مرشد۔ پھل۔ نتیجہ ۔ کامیابی ۔ سیہہ کے انمرت بولا۔ الہٰی کلام کے روحای واخلاقی زندگی بنانےو الے کلام و واعظ سے (4) سہیلیؤ ۔ ہم سفرساتھیوں۔ گھر ۔ نہایت زیادہ ۔ پیار ۔ کیریا ۔ داسیا۔ ہم سب اسکے خدمتگار غلام ہیں ساچا خصم ہمارا۔ وہ ہمارا صدیوی آقا و مالک ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے زندگی کے مسافرو زندگی کے سفر کے لئے ریاضت و عبادت کا ایک قاعدہ اور بیڑا تیار کرؤ جس کے ذریعے صحیح سلامات زندگی کا سفر طے ہو سکتے ۔ نہ راستے میں سمندر جیسی دشوار گذاریان آئیں نہ مدوجزر جوار بھاٹا اور لہریں اُٹھیں ایسا زندگی کا سفر آسان بن جائے (1) اے خدا تیرا نام سچ صدیوی سچ حق وحقیقت ہی ایسا پختہ ہے جس سے روحانی زندگی مستقل اور صدیوہ ہو جاتی ہے (1) رہاؤ۔ اے دوست تیرے ساتھی جا رہے ہیں جو تیرے ہم سفر تھے کیسے ملاپ ہوگا۔ اگر ہوں اوصاف دامن تو وہ خود ہی اپنا ساتھ و ملاپ دے دیتا ہے (2) جسے وصل وملاپ ہو تو جدائی نہیں ہوتی اسکا تناسخ مٹ جاتا ہے اور صدیوی ہے سچا خدا (3) خودپسندی اور خودی ختم کرکے اپنے آپ کو درست کیا۔ سبق و کلام مرشد سے یہ نتیجہ حاصل ہوا کہ خدا کا آب حیات جیسا کلام حاصل ہوا جس میں زندگی روحانی بنانے کی توفیق ہے (4)
نانک کہتا ہے اے ساتھیوں مجھے خدا سے بھاری صحبت ہے ۔ ہم خدا کے خدمتگار غلام ہیں وہ ہمارے سچا صدیوی مالک ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧॥
جِن کءُ بھاںڈےَ بھاءُ تِنا سۄارسیِ ॥
سوُکھیِ کرےَ پساءُ دوُکھ ۄِسارسیِ॥
سہسا موُلے ناہِ سرپر تارسیِ ॥੧॥
تِن٘ہ٘ہامِلِیاگُرُآءِجِنکءُلیِکھِیا॥
انّم٘رِتُہرِکاناءُدیۄےَدیِکھِیا॥
چالہِ ستِگُر بھاءِ بھۄہِنبھیِکھِیا॥੨॥
جا کءُ مہلُ ہجوُرِ دوُجے نِۄےَکِسُ॥
درِ درۄانھیِناہِموُلےپُچھتِسُ॥
چھُٹےَ تا کےَ بولِ ساہِب ندرِ جِسُ ॥੩॥
گھلے آنھے آپِ جِسُ ناہیِ دوُجا متےَ کوءِ ॥
ڈھاہِ اُسارے ساجِ جانھےَ سبھ سوءِ ॥
ناءُ نانک بکھسیِس ندریِ کرمُ ہوءِ ॥੪॥੩॥੫॥
لفظی معنی:
بھانڈے ۔ برتن ۔ مراد ذہن یا دل ۔ بھاؤ۔ پریم ۔ پیار۔ تناں ۔ انہیں۔ سوارسی۔ درست کرتا ہے ۔سوکھی ۔ آرام و آسائش ۔ پساؤ ۔ پسارا ۔ پھیلاؤ ۔ دوکھ وسارسی ۔ عذاب بھلاتا یا مٹا تا ہے ۔ سہسا۔ فکر۔ تشویش۔ مولے ۔ بالکل۔ سر ہر ۔ ضرور۔ تارسی ۔ کامیابی عنایت کرتا ہے (1) یکھیا۔ اعمالنامے میں تحریر ۔ ہر کا ناؤں ۔ الہٰی نام ۔ سچ ۔ حق۔ وحقیقت ۔ انمرت۔ آب حیات ۔ جس سے زندگی روحانی و اخلاقی بنتی ہے ۔ دیکھیا۔ نصیحت ۔ سبق ۔ واعظ۔ بھائے ۔ رضا۔ بھولے ۔ بھٹکنا۔ بھکھیا۔ خیرات۔ محل۔ ٹھکانہ ۔ حضور۔ حضوری میں حاضری میں۔ لوے ۔ جھکے ۔ در۔ دروازہ۔ دربانی ۔ پہرے داری ۔ مولے ۔ بالکل ہی ۔ بول ۔ زبان۔ صاحب ندر۔ جس پر ہو نظر عنایت و شفقت خدا کی ۔ گھلے ۔ آنے ۔ الاتا اور بھیجتا ۔ دوجا متے کوئے ۔ دوسرا صلح مشورہ دینے والا نہیں کوئی ۔ ساج ۔ ساز۔ بنانے والا۔ ندری کرم ۔ نظر عنایت و شفقت۔
ترجمہ معہ تشریح:
جن کے دل میں الہٰی پریم پیار ہے ان کی طرز زندگی خدا درست کرتا ہے ان کو آرام وآسائش عنایت کرتا ہے اور عذآب ومصائب بھلا دیتا ہے ۔ اس بات میں ذرا بھی شک و شبہ نہیں کرانہیں کامیابی بخشتا ہے (1) جن کے اعمالنامے میں تحریر ہوتا ہے انہیں وصل مرشد حاصل ہوا جاتا ہے ۔ انہیں مرشد الہٰی نام جس سے انسانی زندگی روحانی واخلاقی بنتی ہے آب حیات کا سبق وواعظ دیتا ہے ۔ جو رضائے مرشد مرید مرشد ہوکر اسکے بتائے ہوئے طرز عمل پر جو رضائے مرشد مرید مرشد ہوکر اسکے بتائے ہوئے طرز عمل پر چلتا ہے ۔ انہیں کہیں بھٹکنا اور خیرات نہیں مانگنی پڑتی (2) جسے الہٰی حضوری حاصل ہو وہ کسی کے آگے جھکتا نہیں پڑتا ۔ اسکے در پر رسائی حآصل ہو جسے تحقیق نہیں ہوتی اس کی اسکے کلام سے نجات ملتی ہے جس پر نظر عنایت ہو مالک عالم کی (3) خدا خود ہی انسان کو زندگی عنایت کرتا ہے اور خود ہی یہا نسے بھیجتا ہے ۔ اسےد وسرا کوئی صلاح و مشورہ دینے والا نہیں دوسرا۔ خدا خود ہی اس عالم کو بنانے والا اور خود ہی مٹانے والا ہے ۔ اے نانک۔ جس پر الہٰی نظر عنایت و شفقت ہوتی ہے اسے خدا اپنا نام سچ حق و حقیقت عنایت کرتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧॥
بھاںڈا ہچھا سوءِ جو تِسُ بھاۄسیِ॥
بھاںڈا اتِ ملیِنھُ دھوتا ہچھا ن ہوئِسیِ ॥
گُروُ دُیارےَ ہوءِ سوجھیِ پائِسیِ ॥
ایتُ دُیارےَ دھوءِ ہچھا ہوئِسیِ ॥
میَلے ہچھے کا ۄیِچارُآپِۄرتائِسیِ॥
متُ کو جانھےَ جاءِ اگےَ پائِسیِ ॥
جیہے کرم کماءِ تیہا ہوئِسیِ ॥
انّم٘رِتُہرِکاناءُآپِۄرتائِسیِ॥
چلِیا پتِ سِءُ جنمُ سۄارِۄاجاۄائِسیِ॥
مانھسُ کِیا ۄیچاراتِہُلوکسُنھائِسیِ॥
نانک آپِ نِہال سبھِ کُل تارسیِ ॥੧॥੪॥੬॥
لفظی معنی:
بھانڈا ۔ دل ۔ ذہن ۔ سوئے ۔و ہی ۔ تس۔ اسے ۔ بھاوسی ۔ اسے اچھا لگے ۔ جس کو وہ پیار کرے یا اسکا پیارا ہو۔ ملین ۔ میلا۔ ناپاک۔ دہوتا۔ بیرونی صفائی ۔ ہچھا ۔ پاک۔ گرو دوآرے ۔ درمرشد ۔ سوجہی ۔ سمجھ ۔ ایت دوآرے ۔ اس در پر ۔ وچار۔ سوچ سمھ ۔ درتائیسی ۔ دلاتا ہے ۔ دیتا ہے ۔ مت کو جانے جائے ۔ کوئی یہ نہ سمجھ لے ۔ اگے پائسی ۔ عاقبت میں ملیگا۔ گرم کمائے ۔ جیسے اسے اعمال کئے ہیں ۔ ویسا ہوئسی ۔ ویسا ہی اسکا نتیجہ ہوگا۔ انمرت ہر کا ناؤں ۔ آب حیات ہے ۔ الہٰی نام ۔ مراد وہ پانی ۔ جس سے انسانی زندگی روحانی واخلاقی ہو جاتی ہے ۔ درتائسی ۔ دیتا ہے ۔ پت سیؤ۔ با عزت ۔ جنم سوار۔ زندگی درست کرکے ۔ واجا وائسی ۔ خوشیؤں سے ۔ مانس۔ انسان۔ تیہہ لوک ۔ تینوں عالموں۔ نہال۔ خوش۔ سب کل تارسی ۔ سارے خاندان کو کامیاب بنائے گا۔
ترجمہ معہ تشریح
وہی ذہن و دل ہے پاک ہے جو الہٰی رضا و رغبت میں ہے ناپاک قلب بیرونی صفائی سے پاک نہیں ہو سکتا۔ در مرشد سے اس کی سمجھ آتی ہے ۔ اس در پر ہی قلب کی صٖائی ہو سکتی ہے ۔ پاک و ناپاک کی عقل و ہوش اور سمجھ خدا خود دیتا ہے ۔ کوئی یہ نہ سمجھے کہ عاقبت میں اسکا پتہ چلیگا ۔ جیسے انسان کے اعمال ہونگے ویسا ہی وہ ہو جائیگای ۔ الہٰی نام آب حیات ہے ۔ جو خدا خود دیتا ہے ۔ا سطرح سےا سنان اپنی زندگی باعزت اور باخالق و روحانی بنا کر اپنی شہرت و ناموس پیدا کرکے تینوں علامون میں شان و شوکت اور شہرت پھیلاتا ہے خدا۔ اے نانک۔ وہ شخص خود خوشباش رہتا ہے اور خاندان کو کامیاب بناتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧॥
جوگیِ ہوۄےَجوگۄےَبھوگیِہوۄےَکھاءِ॥
تپیِیا ہوۄےَتپُ کرے تیِرتھِ ملِ ملِ ناءِ ॥੧॥
تیرا سدڑا سُنھیِجےَ بھائیِ جے کو بہےَ الاءِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جیَسا بیِجےَ سو لُنھے جو کھٹے سد਼ کھاءِ ॥
اگےَ پُچھ ن ہوۄئیِجےسنھُنیِسانھےَجاءِ॥੨॥
تیَسو جیَسا کاڈھیِئےَ جیَسیِ کار کماءِ ॥
جو دمُ چِتِ ن آۄئیِسو دمُ بِرتھا جاءِ ॥੩॥
اِہُ تنُ ۄیچیِبےَکریِجےکولۓۄِکاءِ॥
نانک کنّمِ ن آۄئیِجِتُتنِناہیِسچاناءُ॥੪॥੫॥੭॥
لفظی معنی :
جو گوئئے ۔ جو گیوں کے کام کرتا ہے ۔ بھوگی ۔ دنیاوی نعمتوں کو تصارف میں لانے والا۔ تپیا ۔ تپسیا کرنے والا۔ تیرتھ ۔ زیارت گاہ (1) سدڑا ۔ سنیہا ۔ پیغام ۔ واعظ ۔ کلام۔ بہے الائے ۔ بیٹھ کر سنائے (1) رہاؤ۔ لتے ۔ کاٹے ۔ گھٹے ۔ کمائے ۔ پچھ ۔ تحقیق ۔ پڑتال ۔ نیسانے ۔ پروانہ راہداری (2) تیسو ۔ وسیا۔ گاڈھیئے ۔ ہلاتا ہے ۔ جیسی کار کمائے ۔ جیسے اس کے اعمال ہیں۔ دم۔ سانس ۔ چت نہ اوئی ۔ یاد نہیں آتا۔ برتھا۔ بیکار ۔ بیفائدہ (3) ایہہ تن ۔ یہ جسم۔ بیو کری ۔ قیمتاً ۔ فروخت۔ وکائے ۔ فروخت کرؤں۔ سچا ناؤ۔ سچا نام۔ سچ وحقیقت۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تیرا پیغام تیرا کلام سنیں اگر کو بیٹھ کر سنائے (1) رہاؤ۔ جو گی اپنے جگہوں والے کام کرتا ہے اور خانہ دار وہ دنیاوی نعمتوں کو صرف کرتا ہے ۔ تیپسوی تپ کرتا ہے اور زیارت گاہوں پر خوب غسل کرتا ہے ۔ جیسا کوئی بوتا ہے ویسا وہ کٹتا ہے اور جو کماتا ہے تصارف میں لاتا اور کھاتا ہے ۔ ان کی کسی قسم کی آئندہ عاقبت میں کوئی تحقیق و پڑتا ل نہیں ہوتی جن کے پاس پروانہ راہداری نیکنامی ہوتا ہے (2) جیسے کسی کے اعمال ہوتے ہیں وہ کام کرتا ہے ویسا وہ کہاتا ہے ۔ وہ جو بغیر یاد خاد سانس گذرجاتا ہے وہ بیکار چلا جاتا ہے (3) اے نانک۔ جس جسم میں سچا نام سچ حق وحقیقت نہیں کسی کام آنے وال انہیں۔ اگر کوئی اسکے عوض الہٰی نام ملے تو میں اپنا جسم اسے فروخت کردوں۔

سوُہیِ مہلا ੧ گھرُ ੭
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ ॥
جوگُ ن کھِنّتھا جوگُ ن ڈنّڈےَ جوگُ ن بھسم چڑائیِئےَ ॥
جوگُ ن مُنّدیِ موُنّڈِ مُڈائِئےَ جوگُ ن سِنّگنْیِ ۄائیِئےَ॥
انّجن ماہِ نِرنّجنِ رہیِئےَ جوگ جُگتِ اِۄپائیِئےَ॥੧॥
گلیِ جوگُ ن ہوئیِ ॥
ایک د٘رِسٹِ کرِ سمسرِ جانھےَ جوگیِ کہیِئےَ سوئیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جوگُ ن باہرِ مڑیِ مسانھیِ جوگُ ن تاڑیِ لائیِئےَ ॥
جوگُ ن دیسِ دِسنّترِ بھۄِئےَجوگُنتیِرتھِنائیِئےَ॥
انّجن ماہِ نِرنّجنِ رہیِئےَ جوگ جُگتِ اِۄپائیِئےَ ॥੨॥
ستِگُرُ بھیٹےَ تا سہسا توُٹےَ دھاۄتُۄرجِرہائیِئےَ॥
نِجھرُ جھرےَ سہج دھُنِ لاگےَ گھر ہیِ پرچا پائیِئےَ ॥
انّجن ماہِ نِرنّجنِ رہیِئےَ جوگ جُگتِ اِۄپائیِئےَ॥੩॥
نانک جیِۄتِیامرِرہیِئےَ ایَسا جوگُ کمائیِئےَ ॥
ۄاجےباجھہُسِنّگنْیِۄاجےَتءُنِربھءُپدُپائیِئےَ॥
انّجن ماہِ نِرنّجنِ رہیِئےَ جوگ جُگتِ تءُ پائیِئےَ ॥੪॥੧॥੮॥
لفظی معنی :
جوگ ۔ الہٰی ۔ ملاپ کے لئے ۔ طور طریقہ ۔ کھنتھا۔ گودڑی ۔ بھسم۔ راکھ ۔ مندی ۔ مندراں۔ ڈنڈے ۔ لاٹھی ۔ چڑھایئے ۔ راکھ ملنے سے ۔ مولڈ منداییئے ۔ سر منڈوالے سے ۔ سنگی دایئے ۔ سنگی بچانے میں۔ انجن ماہے ۔ کالخ میں ۔ نرنجن۔ بیداغ ۔ جوگ جگت۔ الہٰی ملاپ کا طریقہ ۔ اد۔ اسطرح (1) گلی ۔ باتوں سے زبانی ۔ ایک درسٹ ۔ ایک نظر۔ سمسر۔ یکساں ۔ برابر۔ جانے سمجھے ۔ سوئی ۔ اسے (1) رہاؤ۔ مڑھی ۔ قبروں میں۔ مسانی ۔ شمشان گھاٹ ۔ تاڑی ۔ سمادھی۔ یکسوئی ۔ ۔ ویس دسنتر ۔ بھوئے ۔ ویس بدیس کے سفر میں بھٹکنے میں۔ تیرتھ نایئے ۔ زیارت گاہوں پر غسل کرنے میں (2) ستگر بھیٹے ۔ سچے مرشد کے ملاپ سے ۔ سہسا نوٹے ۔ فکر اور تشویش ختم ہوتی ہے ۔ دھاوت درج رہاہیئے بھٹکتے دل رکھتا ہے ۔ نبھر ۔ نہ جھرے والا۔ چشمہ ۔ جھرنا۔ جھرے ۔ سبق مرشد میں ذہن سے روحانی ۔ کلام کا بہاؤ۔ سہج دھن۔ روحانی سکون میںس سنگیت ۔ پر چا۔ بندی پریچیئہ ۔ واقفیت (3) جیوتای ۔ دوران حیات ۔ جیتے ہوئے ۔ مر رہیئے ۔ خواہشات نفسانی کاتدارک ۔ واجے باجہو سنگی واجے ۔ بغیربناجے واجر یجے ۔ روحانی سنگیت ہو ۔ تو ۔ تب۔ نر بھوپد ۔ بیخوفی رتبہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
گودڑی پہن لینے ہاتھ میں ڈنڈا پکڑنےا ور ببھوت یا راکھ جسم پر لگانے سے الہٰی وصل حاصل نہیں ہوسکتا ۔ اور نہ ہی کانوں میں مندر اں ڈالنے سر منڈوانے اور سنگی بجانے سے بلکہ اس سیاسی بھرے عال میں بیداغ اور پاک رہنے سے الہٰی وصل حاصل ہوتا ہے (1) زبانی باتوں سے وصل و ملاپ نہیں ہوتا سب کو ایک نظر اور برابر سمجھنے سے ہوتا ہے (1) رہاؤ۔ باہر شمشانوں یا قبرستانوں میں رہنے اور یکسو ہوکر دھیان لگانے ویسن بدیش کی یاتراؤں اور سفر میں بھٹکنے زیارت گاہوں پر غسل گرنے سے بھی الہٰی وصل حاصل نہیں ہووتا۔ الہٰی ملاپ دنیاوی دؤلت کی محبت کی کالخ سے اسمیں رہتے ہوئے بیداغ بیلاگ رہنے سے حاصل ہوتا ہے (2) سچے مرشد کے ملاپ سے فکر و تشویش مٹتی ہے اور بھٹکتے دل کو ٹھہراؤ اور سکون ملتا ہے ذہنی علم و روشنی کا بند چشمہ بہنے لگتا ہے اور روحانی سکون کی لرہیں جاری ہوجاتی ہیں اور دل میں ہی الہٰی شراکت پیدا ہوجاتی ہے ۔ اللہ تعالیٰ یا خدا سے پہچا ن بن جاتی ہے ۔ اس طرح سے دنیا میں جو کالخ سے بھری ہوئی ہے بیداغ زندگی مل جاتی ہے یہی الہٰی وصل و ملاپ کا طریقہ ور ذریعہ ہے (3) اے نانک الہٰی ملاپ کے لئے ایسا جہدو ریاض کیجیئے کہ دنیاوی کاروبار میں مشغول رہنے کے باوجود اخلاقی دتمدنی و سماجک برائیوں سے پرہیز اور دور رہے ایسی کوشش کرنے والے کے دل میں روحانیت پیدا ہوجاتی ہے جن میں وہ بیخوف ہوجاتا ہے جس سے اسے روحانی سرور ملتاہے ۔

سوُہیِ مہلا ੧॥
کئُنھ تراجیِ کۄنھُتُلاتیراکۄنھُسراپھُبُلاۄا॥
کئُنھُ گُروُ کےَ پہِ دیِکھِیا لیۄاکےَپہِمُلُکراۄا॥੧॥
میرے لال جیِءُ تیرا انّتُ ن جانھا ॥
توُنّ جلِ تھلِ مہیِئلِ بھرِپُرِ لیِنھا توُنّ آپے سرب سمانھا ॥੧॥ رہاءُ ॥
منُ تاراجیِ چِتُ تُلا تیریِ سیۄسراپھُکماۄا॥
گھٹ ہیِ بھیِترِ سو سہُ تولیِ اِن بِدھِ چِتُ رہاۄا॥੨॥
آپے کنّڈا تولُ تراجیِ آپے تولنھہارا ॥
آپے دیکھےَ آپے بوُجھےَ آپے ہےَ ۄنھجارا॥੩॥
انّدھُلا نیِچ جاتِ پردیسیِ کھِنُ آۄےَتِلُ جاۄےَ॥
تا کیِ سنّگتِ نانکُ رہدا کِءُ کرِ موُڑا پاۄےَ॥੪॥੨॥੯॥
لفظی معنی :
ترازی ۔ تولنے کا پیمانہ تکڑی ۔ تلا۔ وٹے ۔ صراف۔ اسکی قیمت بتانے والا۔ کرو۔ مرشد۔ کے پیہہ۔ کس سے ۔ دیکھیا۔ سبق۔ مل۔قیمت (1) انت۔ شمار ۔ آخر۔ جل۔ تھل مہیئل۔ زمین۔ سمندر اور خلایا آسمان ۔ بھر پر ۔ مکمل طور پرا۔ آپے سرب سمانا۔ اور سب میں خود ہی بستا ہے (1) رہاؤ۔ من ترازی ۔ دل ترازو بانکڑی ہے ۔ دل ہی بٹے یا تول کا پیمانہ ۔ سیو۔ خدمت۔ صراف کماوا۔ خدمت کرنا ہی قیمت اندازی ہے ۔ گھٹ ہی بھیتر ۔د لمیں ہی ۔ سوسوہ ۔ وہ آقا۔ تولی ۔ قیمت اندازی یا تولنا۔ ان بدھ۔ اس طریقے سے ۔ چت ر۔ رہاؤ۔ دل کو کو سکون ملتا ہے (2) کنڈا۔ ترازو کی ڈنڈی ۔ تولنہارا۔ تولنے والا۔ آپے بوجھے ۔ خود ہی سمجھتا ہے ۔و نجرا۔ سوداگر (3) اندھلا۔ اندھا۔ نا عاقبت اندیش ۔ پنچ ۔ نیواں۔ کمینہ ۔ ذات ۔ خاندان ۔ پردیسی ۔ بدیشی ۔ دوسرے ملک کا باشندہ ۔ کھن آوے تل جاوئے کھن۔ آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے آتا ہے ۔ تل تھوڑی دیر بعد چلا جاتا ہے مراد سکون نہیں پاتا۔ تاکی سنگیت ۔ اسکی صحبت میں۔ موڑا۔ بیوقوف۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے پیارے خدا مجھے تیری قدروقیمت کی شناخت نہیں تو زمین آسمان اور سمندر زمین بھی بستا ہے (1) راہؤ۔ اے خدا مجھے ایسی وکوئی تکڑی بٹے دکھائی جس سے اوصاف کی قدوقیتم کا اندازہ یا شمار ہو سکے نہ ہی اسیا صراف دکھائی دیتا ہے جو شناخت کر سکے اسے بلایا جائے ۔ استد ۔ وکھائی دیتا ہے ۔ جس ان اوآسف کی قدرقیمت کا اندازہ لگانا اس کے سبق سے سمجھ لوں اس سے قیمت یا شمار کروالوں (1) اے اسنان اگر ذہن دل ودماغ ہی ترازو اور بٹے بن جائے اور الہٰی خدمت و شناخت کرے تو یہ صراف خدا شناس ہو جائے ۔ تو اس سے تجھے روحانی سکون حاصل ہوتا اور تیرے دل میں خدا بس جائیگا (2) خدا خود ہی ترازو اور بٹے ہے اور خود ہی اپنے اوصاف کی قدروقیمت کو جاننے والا خود ہی س ترازو کا گنڈا یا ڈنڈی خود ہی نگراں اور تولنے والا تولا وامراد شناخت کرنے والا صراف اور خود ہی خریدار سوداگر (3) اے نانک۔ کمینہ بدذات بدیشی جس نے سکون نہیں اسکے اوصاف کی قدروقیمت نہیں ادا کر سکتا (4)

راگُ سوُہیِ مہلا ੪ گھرُ ੧
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
منِ رام نامُ آرادھِیا گُر سبدِ گُروُ گُر کے ॥
سبھِ اِچھا منِ تنِ پوُریِیا سبھُ چوُکا ڈرُ جم کے ॥੧॥
میرے من گُنھ گاۄہُرامنامہرِکے॥
گُرِ تُٹھےَ منُ پربودھِیا ہرِ پیِیا رسُ گٹکے ॥੧॥ رہاءُ ॥
ستسنّگتِ اوُتم ستِگُر کیریِ گُن گاۄےَہرِپ٘ربھکے॥
ہرِ کِرپا دھارِ میلہُ ستسنّگتِ ہم دھوۄہپگجنکے॥੨॥
رام نامُ سبھُ ہےَ رام ناما رسُ گُرمتِ رسُ رسکے ॥
ہرِ انّم٘رِتُہرِجلُپائِیاسبھلاتھیِتِستِس کے ॥੩॥
ہمریِ جاتِ پاتِ گُرُ ستِگُرُ ہم ۄیچِئوسِرُگُرکے॥
جن نانک نامُ پرِئو گُر چیلا گُر راکھہُ لاج جن کے ॥੪॥੧॥
لفظی معنی :
رام نام۔ الہٰی نام ۔ ارادھیا ۔ دھیان لگائیا۔ گرسبد۔ کلام مرشد۔ گرو گر کے ۔ مرشد کے مرشد۔ اچھا۔ خواہشات۔ من تن ۔ دل وجان۔ سبھ چوکا ۔ تمام مٹآ ۔ دور وہا۔ دڑ۔ خوف۔ جم کے ۔ فرشتہ موت کا۔ گر تٹھے ۔ خوشنودی مرشد سے ۔ من پر لودھیا۔ بیدار ہوا۔ ہر پیار س گٹے ۔ الہٰی لطف حاصل کیا اور مزہ لیا (1) رہاؤ۔ گن گاوہو ۔ صفت صلاح کرؤ۔ ست سنگت۔ سچھی صحبت ۔ اُتم ۔ بلند پایہ ۔ ستگر کیری ۔ سچے مرشد کا لطف ۔ رس رسکے ۔ لطف مزے سے ۔ ہر ۔ خدا۔ انمرت جل۔ روحانیت کا پانی ۔ لاتھی مٹی ۔ تس۔پیاس (3) جا ت پات۔ خاندان و عزت۔ ویچؤ۔ فروخت کیا۔ سر گر کے ۔ مرشد کو ۔ جن نانک۔ خادم نانک۔ پریؤ ۔ پڑگیا گر چیلا۔ مرشد و مرید ۔ راکہو لاج ۔ عزت رکھیئے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل الہٰی نام کی حمدوثناہ کر خوشنودئے مرشد سے دل میں بیداری پیدا ہوئی ۔ اس سے انسان الہٰی نام کا لطف کا مزہ اُٹھاتا ہے (1) رہاؤ۔ جس نے الہٰی نام ( حق ۔ سچ وحقیقت ) میں اپنا دھیان لگائیا کلام یا سبق مرشد کے ذریعے یا وسیلے سے اسکی دل وجان کی تمام خواہشات پوری ہوئیں اور فرشتہ موت کا خوف مٹا (1) صحبت و قربت پاکدامناں بلند پایہ اور بلند درجہ ہے اس میں جو کوئی الہٰی صفت صلاح کرتا ہے اے خدا کرم و عنایت فرما ایسی صحبت و قربت پاکدامن عنایت کرتا کہ انکے پاؤں دہوؤں (2) سارا الہٰی نام ہی ہے ۔ اسکا لطف سبق مرشد پر عمل کرنے سے اُٹھائیا جا سکتا ہے ۔ الہٰی آب حیات نام جس سے زندگی روانیت کے مطابق ہو جاتی ہے اس کے پیاسے کی پیاس اس سے مٹ جاتی ہے (3) میری عزت و آبرور اور خاندان میرا مرشد ہے میں نے اپنا سر مرشد کو فروخت کر دیا ہے ۔ اے خدمتگار نانک۔ میرا نام اب مرید مرشد ہوگیا ہے ( گروکا سکھ ) اب اپنے مرید کی عزت رکھ ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
ہرِ ہرِ نامُ بھجِئو پُرکھوتمُ سبھِ بِنسے دالد دلگھا ॥
بھءُ جنم مرنھا میٹِئو گُر سبدیِ ہرِ استھِرُ سیۄِسُکھِسمگھا॥੧॥
میرے من بھجُ رام نام اتِ پِرگھا ॥
مےَ منُ تنُ ارپِ دھرِئو گُر آگےَ سِرُ ۄیچِلیِئومُلِمہگھا॥੧॥ رہاءُ ॥
نرپتِ راجے رنّگ رس مانھہِ بِنُ ناۄےَپکڑِکھڑےسبھِکلگھا॥
دھرم راءِ سِرِ ڈنّڈُ لگانا پھِرِ پچھُتانے ہتھ پھلگھا ॥੨॥
ہرِ راکھُ راکھُ جن کِرم تُمارے سرنھاگتِ پُرکھ پ٘رتِپلگھا॥
درسنُ سنّت دیہُ سُکھُ پاۄےَ پ٘ربھلوچپوُرِجنُتُمگھا॥੩॥
تُم سمرتھ پُرکھ ۄڈےپ٘ربھسُیامیِموکءُکیِجےَدانُہرِنِمگھا॥
جن نانک نامُ مِلےَ سُکھُ پاۄےَہمنامۄِٹہُسدگھُمگھا॥੪॥੨॥
لفظی معنی :
پرکھوتم۔ اس بلند ہستی ۔ والد۔ ولدر۔ منسوحات ۔ محرومیت ۔ غریبی ۔ کنگالی ۔ استھر۔ مستقل ۔ صدیوی ۔ سیو ۔ خدمت کرکے ۔ سکھ سگھا ۔ آرام و آسائش پائیا (1) بھج ۔ یاد کر۔ رام نام۔ الہٰی نام۔ ات پرگھا۔ نہایت پیارا۔ ارپ دھیریؤ۔ ھیٹ کی ۔ مل مہگا۔ بیش قیمت میں (1) رہاؤ۔ نرپت۔ حکمران ۔ رنگ رس مانیہہ۔ پیار کا لطف لیتے ہیں۔ بن ناوے ۔ بغیر الہٰی نام ۔ سچ وحقیقت کے ۔ گلگھا ۔ روحانی موت نے ۔ دھرم رائے ۔ الہٰی جج یا منصف ۔ ڈنڈ۔ سا۔ ہتھ ۔ پھلگا۔ جب ۔ اسکا نتیجہ نکالا (2) کرم۔ کیڑے ۔ نادار۔ سرناگت ۔ پشت پناہی میں۔ پر پتلگا۔ پرورش کرنے والا۔ روشن ۔ دیدار۔ سنت۔ خدا رسیدہ روحانی رہبر۔ لوچ ۔ خواہش۔ جن گمگھا ۔ تیرا غلام۔ خادم (3) سمرتھ ۔ باتوفیق۔ دان ۔ خیرات۔ بھیک ۔ نمگھا۔ ذراسی (3) نام وٹہو۔ نام یعنی حق سچ وحقیقت پر ۔ گھمگا۔ قربان ہوں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل الہٰی نام جو نہایت پیارا ہے یاد کر ۔ میں اپنی دل و جان مرشد کو بھینٹ کر دی ہے اور اسکی بھاری قیمت فروخت کیا ہے (1) رہاؤ۔ اے انسانوں اس بلند ہستی کے نام سچ وحقیقت کو یاد کر ؤ تاکہ اسکی ساری غربتیں مٹ جاتی ہیں۔ تناسخ کا خوف مٹا جاتا ہے کلام مرشد سے صدیوی خدا کی خدمت سے آرام و آسائش نصیب ہوتی ہے ۔ دنیاوی حکمران پیار پریم کے مزے لیتے ہیں مگر الہٰی نام حق سچ وحقیقت سے بے بہرہ ہوتے ہیں اور روحانی واخلاقی موت کی گرفت میں رہتے ہیں ۔ الہٰی منصف سے سزا پاتے ہیں اور الہٰی ڈانڈا انکے سر پر پڑتا ہے جب اپنے کئے اعمال کا نتیجہ بھگتے ہیں تو پچھتا تے ہیں (2) اے خدا بچاؤ ہم نا چیز کیڑے اے پرودگار تیری پشت پناہ میں آئے ہیں اے خدا میری خواہش پوری کر دیدار روحانی واخلاقی رہبر کا دیدار عنایت کرتا کہ روحانی و زہنی سکون حاصل ہو (3) اے خدا تو بلند رتبہ آقا ہے مجھے الہٰی نام کی خیرات عنایت کر تو ہر طرح کی توفیق رکھتا ہے ۔ اے خدمتگار نانک نام کے حصول سے آرام و آسائش حاصل ہوتا ہے ۔ میں ہمیشہ نام سچ حق وحقیقت پر قربان ہوں۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
ہرِ ناما ہرِ رنّگنُْ ہےَ ہرِ رنّگنُْ مجیِٹھےَ رنّگنُْ ॥
گُرِ تُٹھےَ ہرِ رنّگُ چاڑِیا پھِرِ بہُڑِ ن ہوۄیِبھنّگنُْ॥੧॥
میرے من ہرِ رام نامِ کرِ رنّگنُْ ॥
گُرِ تُٹھےَ ہرِ اُپدیسِیا ہرِ بھیٹِیا راءُ نِسنّگنُْ ॥੧॥ رہاءُ ॥
مُنّدھ اِیانھیِ منمُکھیِ پھِرِ آۄنھجانھاانّگنُْ॥
ہرِ پ٘ربھُچِتِنآئِئومنِدوُجابھاءُسہلنّگنُْ॥੨॥
ہم میَلُ بھرے دُہچاریِیا ہرِ راکھہُ انّگیِ انّگنُْ ॥
گُرِ انّم٘رِتسرِنۄلائِیاسبھِلاتھےکِلۄِکھپنّگنُْ॥੩॥
ہرِ دیِنا دیِن دئِیال پ٘ربھُستسنّگتِمیلہُسنّگنُْ॥
مِلِ سنّگتِ ہرِ رنّگُ پائِیا جن نانک منِ تنِ رنّگنُْ ॥੪॥੩॥
لفظی معنی :
ہرناما۔ الہٰی نام ۔ ہر رنگ۔ الہٰی پیار۔ ہر رنگ ۔ مجیٹے رنگ ۔ الہٰی پیار کو پکا پختہ پیار بنا۔ گر تٹھے ۔ مرشد کی خوشی یا کرم و عنایت سے ۔ بہوڑ۔ دوبارہ۔ ہودی بھنگ۔ اُترنا نہیں (1) ہر رام نام ۔ الہٰی نام۔ کر رنگ۔ پیار کر ۔ اُپدیسیا۔ سبق و نصیحت کی ۔ بھیٹیا۔ ملاپکیا۔ نسنگ ۔ بلا جھجھک (1) رہاؤ۔ مندھ ایانی ۔ بے سمجھ نادان۔ منمکھی ۔ خود پسندی ۔ مرید من ۔ آون جانا۔ تناسخ۔ انگ۔ ساتھ ۔ دوجا بھاؤ۔ دوسروں سے محبت ۔ سیہہ لنگھ ۔ ساتھی (2) وہچاریا ۔ بد کار ۔ بد چلن ۔ میل بھرے ۔ ناپاک۔ راکھہو۔ بچاؤ ۔ انگی انگ ۔ ساتھی ساتھ دو۔ انمرت سر نا لائیا۔ آب حیات کے سمندر میں گصل کرائیا۔ سب لاتھے ۔ سب مٹ گئے ۔ کل وکھ پنگ ۔ زہریلے برائیوں کی دھبے (3) دین دیال۔ غریب پر مہربان۔ ست سنگت ۔ میلو سنگ۔ پاکدامنوں کی صحبت و قربت کا ساتھ دیجیئے ۔ من تن ۔ دل وجان ۔ رن ۔ اثر۔ دل وجان نے اثر قبول کیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل الہٰی نام سے دلی پیار کر۔ مرشد مہربان ہو کر اگر انسان کو اپنے سبق وواعظ سے الہٰی یاد کی نصٰحت کرے تو تو اسکا بلا جھجھک ملاپ ہو جاتا ہے مالک عالم سے (1) رہاؤ ۔ الہٰی نام ہی الہٰی پیار ہے اور الہٰی پیار پختہ پیار ہوتا ہے ۔ اگر مرشد اپنی خوشی ومہربانی سے الہٰی نام کا پیار پیدا کر دے تو دوبارہ ختم نہیں ہوتا (1) جو نادان انسان مرید من ہوکر زندگی گذارتا ہے تو تناسخ اسکا ساتھی وہ اجتا ہے ۔ اسکےد ل میں خدا نہیں بستا اس کے دل میں دنیاوی دولت سے محبت بنی رہتی ہے (2) انسان برائیوں بدکاریوںا ور بد چلنوں کی ناپاکیزگی بھر رہتا ہے ۔ اے ساتھ نبھانے والے خدا اپنے ساتھ سے بچاؤ۔ مرشد نے آب حیات کے سمند رمیں غصل کرادیا جس سے تمام دل سے تمام برائیاںا ور بد اعمالیاں دور ہوگئیں اور برائیوں کے بد نم ا داغ مٹ گئے (3) اے غریب نواز مہربان خدا مجھے پاک دامنوں کی صحبت و قربت عنایت کر ساتھ دیجیئے ۔ اے خادم نانک جس نے اچھے نیک انسانوں کی صحبت و قربت سے الہٰی پیار پالیا ان کا دل وجان میں الہٰی پیار بن گیا ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
ہرِ ہرِ کرہِ نِت کپٹُ کماۄہِہِرداسُدھُنہوئیِ॥
اندِنُ کرم کرہِ بہُتیرے سُپنےَ سُکھُ ن ہوئیِ ॥੧॥
گِیانیِ گُر بِنُ بھگتِ ن ہوئیِ ॥
کورےَ رنّگُ کدے ن چڑےَ جے لوچےَ سبھُ کوئیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جپُ تپ سنّجم ۄرت کرے پوُجا منمُکھ روگُ ن جائیِ ॥
انّترِ روگُ مہا ابھِمانا دوُجےَ بھاءِ کھُیائیِ ॥੨॥
باہرِ بھیکھ بہُتُ چتُرائیِ منوُیا دہ دِسِ دھاۄےَ॥
ہئُمےَ بِیاپِیا سبدُ ن چیِن٘ہ٘ہےَ پھِرِ پھِرِ جوُنیِ آۄےَ॥੩॥
نانک ندرِ کرے سو بوُجھےَ سو جنُ نامُ دھِیاۓ॥
گُر پرسادیِ ایکو بوُجھےَ ایکسُ ماہِ سماۓ॥੪॥੪॥
لفظی معنی :
کپٹ۔ دہوکا۔ فریب۔ ہردا۔ دل ۔ سدھ ۔ اک۔ اندن۔ ہر روز۔ کرم۔ اعمال۔ سپنے ۔ خواب (1) گیانی ۔ عالم ۔ دانشمند۔ بھگت ۔ الہٰی عابد۔ و خدمتگار۔ کورے ۔ عقل و ہوش اور سمجھ کے بغیر رنگ۔ پریم پیار۔ تاثر۔ لوچے ۔ خواہش ۔ کا منا (1) رہاؤ۔ جپ ۔ تپ ۔ عبادت وریاضت ۔ سنجم۔ ضبط۔ درت۔ پرہیز گاری ۔پوجا۔ پرستش۔ منمکہہ۔ خود پسندی ۔ روگ۔ بیماری ۔ اھیمانی ۔ مغرور۔ کھوائی ۔ ذلیل ۔ خوار (2) بھیکھ ۔ دکھاوا۔ چترائی ۔ چالاکی ۔ دہوکا بازی۔ وھاوے ۔ بھٹکنا ہے ۔ ہونمے ۔ خودی ۔ سبد ۔ کلام۔ سق۔ واعظ۔ چینے ۔ سمجھے (3) ندر۔ نظر عنایت و شفقت۔ نام دھیاے ۔ نام ۔ حق سچ وحقیقت میںت وجہ ۔ ایکو بوجھے ۔ وحدت کو سمجھے ۔ ایکس ماہے سماے ۔ وحدت میں محو ومجذوب ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے عالم دانشمند انسان مرشد کے بغیر الہٰی عشق پیدا نہیں ہوتا۔ خواہ کوئی کتنی خواہش کرے جیسے کورے کپڑے پر رنگ نہیں چڑھتا (1) رہاؤ۔ جیسے خدا خدا تو کہتا ہے مگر دہوکا فریب کرتا ہےا ور قلب پاک نہیں وہ بیشمار مذہبی کاموں کے سر انجام دینے کے باوجود خواب میں بھی آرام و آسائش نہیں پا سکتے (1) خودی پسند ریاضت عبادت ، پرستشش پرہیز گاری ضبط کرتے ہیں مگر دل میں غرور اور مغروری ہے ہے ۔ خودی ختم نہیں ہوتی تو دنیاوی دولت کی محبت میں زلیل وخوار ہوتا ہے (2) بیرونی دکھاوے کرتا ہےا ور چالاکیاں اور دہوکے بازاری کرتا ہے اسکی دنیاوی دولت سے محبت ختم نہیں ہوتی گمراہ ہوکر بھٹکتا رہتا ہے ۔ خودی میں سبق و واعظ کی سمجھ اور پہچان نہیں کرتا تناسخ میں پڑا رہتا ہے (3) اے نانک جس پر نظر عنایت ہو وہ سمجھتا ہے اورا لہٰینام سچ حق وحقیقت میں دھیان (لگانے ) لگاتا اور توجو کرتا ہے ۔ رحمت مرشد سے وحدت ک کی سمجھ آتی ہے اور اسی میں محو ومجذوب رہتا ہے۔

سوُہیِ مہلا ੪ گھرُ ੨
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
گُرمتِ نگریِ کھوجِ کھوجائیِ ॥
ہرِ ہرِ نامُ پدارتھُ پائیِ ॥੧॥
میرےَ منِ ہرِ ہرِ ساںتِ ۄسائیِ॥
تِسنا اگنِ بُجھیِ کھِن انّترِ گُرِ مِلِئےَ سبھ بھُکھ گۄائیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہرِ گُنھ گاۄاجیِۄامیریِمائیِ॥
ستِگُرِ دئِیالِ گُنھ نامُ د٘رِڑائیِ॥੨॥
ہءُ ہرِ پ٘ربھُپِیاراڈھوُڈھِڈھوُڈھائیِ॥
ستسنّگتِ مِلِ ہرِ رسُ پائیِ ॥੩॥
دھُرِ مستکِ لیکھ لِکھے ہرِ پائیِ ॥
گُرُ نانکُ تُٹھا میلےَ ہرِ بھائیِ ॥੪॥੧॥੫॥
لفظی معنی :
گرمت۔ سبق مرشد۔ نگری ۔ جسم انسنای ۔ کھوج۔ تلاش ۔ کھجائی ۔ تلاش کر آئی۔پدارتھ ۔ نعمت۔ ہر نام ۔ الہٰی نام ۔ سچ ۔ حق و حقیقت ۔ دیرافت کیا (1) سانت ۔ سکون ۔ تشنا ۔ اگن ۔ خواہشت کی آگ۔ کھن انتر۔ معمولی وقفے اندر۔ گر میلئے ۔ الہٰی ملاپ سے (1) رہاؤ۔ ہرگن گاوا۔ الہٰی اوصاف۔ ستگر ۔ سچا مرشد۔ نام درڑآئی ۔ نام پختہ کرائیا (2) ڈہونڈ ۔ تلاش ۔ ست سنگت ۔ سچی صحبت ۔ ہر رس۔ الہٰی لطف (3) دھر ۔ مستک ۔ الہٰی بارگاہ سے پیشنای پر ۔ لیکھ ۔ تحریر ۔ تٹھا۔ خوش۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرے دل کو سکون ملا اور فوراً خواہشات کی آگ بجھ گئی ۔ اور مرشد کے ملاپ سے میری ساری بھوک ختم ہوگئی (1) رہاؤ۔ سبق مرشد سے اپنے جسم کی تحقیق و تلاش کیا۔ اس میں سےا لہٰی نام کی نعمت دریافت ہوئی پائی (2)
سچے مرشد نے الہٰینام کا وصف پختہ کرادیا اب میری ماں میں الہٰی صفت صلاح کرتا ہوں (2) میں پیارے خدا کی تلاش کرتا ہوں اور سچے ساتھیوں کی صحبت میں اسکا لطف لیتا ہوں (3) پہلے سے اعمالنامے میں میری قسمت یا پیشانی پر تحریر شدہ سے الہٰی ملاپ پائیا۔ اے نانک۔ جس پر مرشد مہربان ہوتا ہے الہٰی ملاپ کرادیتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
ہرِ ک٘رِپا کرے منِ ہرِ رنّگُ لاۓ॥
گُرمُکھِ ہرِ ہرِ نامِ سماۓ॥੧॥
ہرِ رنّگِ راتا منُ رنّگ مانھے ॥
سدا اننّدِ رہےَ دِن راتیِ پوُرے گُر کےَ سبدِ سمانھے ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہرِ رنّگ کءُ لوچےَ سبھُ کوئیِ ॥
گُرمُکھِ رنّگُ چلوُلا ہوئیِ ॥੨॥
منمُکھِ مُگدھُ نرُ کورا ہوءِ ॥
جے سءُ لوچےَ رنّگُ ن ہوۄےَکوءِ॥੩॥
ندرِ کرے تا ستِگُرُ پاۄےَ॥
نانک ہرِ رسِ ہرِ رنّگِ سماۄےَ॥੪॥੨॥੬॥
لفظی معنی :
ہر کرپا۔ الہٰی رحمت ۔ کرم وعنایت ۔ ہر رنگ ۔ الہٰی محبت ۔ گورمکھ ۔ مرشد کے وسیلے سے ۔ ہر نام سمائے ۔ الہٰی نام بسائے ۔ (1) راتا۔ محو ومجذوب۔ من رنگ مانے ۔د ل پیار کا لطف لیتا ہے ۔ انند پر سکون ۔ پورے گر۔ کامل مرشد۔ سبد سمانے ۔ کلام پر عمل کرکے (1) رہاؤ۔ ہر رنگ ۔ الہٰی محبت۔ چلولا ۔ چوں لالہ۔ شوخ۔ (2) منمکہہ ۔ مگدھ نر۔ خودی پسندی بیوقوف انسان ۔ کورا۔ محبت پیار سے بغیر۔ بے سؤ لوچے ۔ خوآہکتنا چاہے (3) ندر۔ نگاہ شفقت۔ ستگر ۔ سچا مرشد۔ ہر رس۔ الہٰی لطف ۔ ہر رنگ۔ الہٰی پیار۔ سماوے ۔ بسائے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دل میں محبت خدا سے اور پریم کا لطف اُٹھاتا ہے ۔ سدا سکون روحانی روز وشب وہ پاتا ہے ۔ کامل مرشد کے دیئے سبق پر ہر دم قائم رہتا ہے اور کماتا ہے () رہاؤ۔ الہٰی رحمت سے ہی دل میں پیار الہٰی بستا ہے ۔ پشت پناہی سے مرشد کی نام الہٰی میں محو ومجذوب وہ رہتا ہے (1) پیار الہٰی چاہتا ہے ہر انسان مگر مرشد کے وسیلے سے شوخ رنگ وہ پاتا ہے گوڑھے پیار کا (2) خود پسندی بیوقوف انسان پیار سے خالی ہوتا ہے خواہش ہو خواہ کتنی پیار الہٰی نہیں مل سکتا (3) نگاہ شفقت ہوکر خدا کی سچے مرشد کا وصل وہ پاتا ہے ۔ اے نانک۔ الہٰی لطف محبت کا اور پیار کا وہ پاتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
جِہۄاہرِرسِ رہیِ اگھاءِ ॥
گُرمُکھِ پیِۄےَسہجِسماءِ॥੧॥
ہرِ رسُ جن چاکھہُ جے بھائیِ ॥
تءُ کت انت سادِ لوبھائیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
گُرمتِ رسُ راکھہُ اُر دھارِ ॥
ہرِ رسِ راتے رنّگِ مُرارِ ॥੨॥
منمُکھِ ہرِ رسُ چاکھِیا ن جاءِ ॥
ہئُمےَ کرےَ بہُتیِ مِلےَ سجاءِ ॥੩॥
ندرِ کرے تا ہرِ رسُ پاۄےَ॥
نانک ہرِ رسِ ہرِ گُنھ گاۄےَ॥੪॥੩॥੭॥
لفظی معنی :
جہوا۔ زبان۔ اگھائے ۔سیر ہوئی ۔ تسکین پائی۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ سہج سمائے ۔ قدرتاً محویت میں۔ قدرتی طور پر پر سکون ہوکر (1) چاکھو۔ لطف لو۔ تؤکت۔ تب کیوں۔ انت ساد۔ دوسرے لطفوں میں لو بھائے ۔ لالچ کرے (1) رہاؤ۔ گورمکھ ۔ مرشد کے ذریعے ۔ اردھار۔ دل میں بساو۔ جو مزہ الہٰی لیت اہے ۔ پیار الہٰی پاتا ہے (2) مرید خود لطف الہٰی لے سکتا نہیں۔ ہر رس چاکھیا نہ جائے ۔ جو مغروری خودی (3) ندر۔ نگاہ شفقت۔ ہر رس۔ الہٰی لطف۔ ہر گن۔ الہٰی صفت صلاح۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں۔ اگر آپ الہٰی لطف لوگے تو دوسرے لطفوں کا لالچ نہ کرو گے (1) رہاؤ۔ زبان الہٰی لطف سے سیر ہو جاتی ہے ۔ وہ مرید مرشد لطف اندوز ہوکر روحانی سکون پاتا ہے ۔ سبق مرشد کا لطف دل میں بساؤ۔ الہٰی لطف میں محو ومجذوب ہو خدا سے ان کا پیار ہوجاتا ہے (2) خود پسندی میں الہٰی پیار کا لطف حاصل نہیں ہو سکتا اور خودی میں زیادہ سزا پاتا ہے (3) اگر الہٰی نگاہ شفقت و عنیات ہو تب ہی الہٰی لطف حاصل ہو سکتا ہے ۔ اے نانک۔ الہٰی لطف سے ہی الہٰی حمدوثناہ ہو سکتی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪ گھرُ ੬
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
نیِچ جاتِ ہرِ جپتِیا اُتم پدۄیِ پاءِ ॥
پوُچھہُ بِدر داسیِ سُتےَ کِسنُ اُترِیا گھرِ جِسُ جاءِ ॥੧॥
ہرِ کیِ اکتھ کتھا سُنہُ جن بھائیِ جِتُ سہسا دوُکھ بھوُکھ سبھ لہِ جاءِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
رۄِداسُچمارُاُستِتکرےہرِکیِرتِنِمکھاِکگاءِ॥
پتِت جاتِ اُتمُ بھئِیا چارِ ۄرنپۓپگِآءِ॥੨॥
نامدیء پ٘ریِتِلگیِہرِسیتیِلوکُچھیِپاکہےَبُلاءِ॥
کھت٘ریِب٘راہمنھپِٹھِدےچھوڈےہرِنامدیءُلیِیامُکھِلاءِ॥੩॥
جِتنے بھگت ہرِ سیۄکامُکھِاٹھسٹھِ تیِرتھ تِن تِلکُ کڈھاءِ ॥
جنُ نانکُ تِن کءُ اندِنُ پرسے جے ک٘رِپاکرےہرِراءِ॥੪॥੧॥੮॥
لفظی معنی :
نیچ ۔ نیچی ۔ کمینی ۔ ہر چپتیا۔ الہٰی یاد وریاضت کرنے سے ۔ اُتم پدوی ۔ بلند رتبہ ۔ بد رداسی ۔ خام بدر۔ بدربھگت ۔ راجہ بچتر ویرج کی خادمہ سیشنا کے پیٹ سے بیا س کا بیٹا تھا اس کے اوصاف کی وجہ سے کرشن مہاراجہ دریؤ دھن کے محلات چھوڑ کر اس کے گھر ٹھہر دتھے (1) اکتھ کتھا۔ وہ کہانی جس کا ذکر نا ممکن ہو۔ سہسا۔ فکر مندی ۔ تشویش۔ لیہہ جائے ۔ ختم ہو جائے (1) رہاؤ۔ استت۔ حمدوتعریف ۔ ہر کیت۔ الہٰی صفت صلاح ۔ حمدوثناہ ۔ نمکھ ۔ آنکھ جھپکنے کے عرصے کے لئے ۔ پتت جات۔ ناپاک ذات۔ اُتم بھیا۔ بلند رتبہ ہوا۔ پگ ۔ پاوں (2) پریت ۔ پیار۔ پٹھ دے چھوڈے ۔ پیچھے چھوڑا۔ مکھ لائے ۔ ترجیح دی ۔ اپنائیا (3) مکھ ۔ پہل۔ ترجیح ۔ اندن ۔ ہر روز۔ پرسے ۔ چھوٹے ۔ بے کرپا کرے ۔ اگر کرم وعنایت فرمائے ۔ ہر رائے ۔ شہنشاہ خدا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں الہٰی صفت صلاح سنو جس کی بر کت سے فکر مندری اور عذاب اور خواہشات کی بھوک مٹ جاتی ہے (1) رہاؤ۔ نیچی ذات والا انسان الہٰی یاد وریاض سے بلند روحانی رتبہ حاصل کر سکتا ہے خادم کے بیٹے بدر کی بابت پوچھو کرشن اسکے گھرٹھہراتھا (1)
روید اس چمار تھا جو خدا کی حمدوثناہ کرتا تھا جسے ناپاک کہتے تھے ۔ بلند روحانی رتبہ حاصل کیا چاروں ذاتوں کے لوگ اسکے پاؤں پڑتے (2) نامدیو کی خدا سے محبت ہوگئی جس نے لوگ چھینبا کہہ کر بلاتے تھے ۔ خدا نے کھتری ۔ برہامن کوپیچھے چھوڑ کر نامدیو کو اپنائی (3) جتنے الہٰی عابد ہوئے ہیں تمام عبادت گاہیں ان کا احرام و عزت افزائی کرتی ہیں۔ اگر الہٰی کرم وعنایت فرمائے تو خادم نانک ہر روز انکے پاؤں چھوئے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
تِن٘ہ٘ہیِانّترِہرِآرادھِیاجِنکءُدھُرِلِکھِیالِکھتُلِلارا ॥
تِن کیِ بکھیِلیِ کوئیِ کِیا کرے جِن کا انّگُ کرے میرا ہرِ کرتارا ॥੧॥
ہرِ ہرِ دھِیاءِ من میرے من دھِیاءِ ہرِ جنم جنم کے سبھِ دوُکھ نِۄارنھہارا॥੧॥ رہاءُ ॥
دھُرِ بھگت جنا کءُ بکھسِیا ہرِ انّم٘رِتبھگتِ بھنّڈارا ॥
موُرکھُ ہوۄےَسُ اُن کیِ ریِس کرے تِسُ ہلتِ پلتِ مُہُ کارا ॥੨॥
سے بھگت سے سیۄکاجِناہرِنامُپِیارا॥
تِن کیِ سیۄاتےہرِپائیِئےَسِرِنِنّدککےَپۄےَچھارا॥੩॥
جِسُ گھرِ ۄِرتیِسوئیِجانھےَجگتگُرنانکپوُچھِکرہُ بیِچارا ॥
چہُ پیِڑیِ آدِ جُگادِ بکھیِلیِ کِنےَ ن پائِئو ہرِ سیۄکبھاءِنِستارا॥੪॥੨॥੯॥
لفظی معنی :
لکھت للار۔ پیشانی پر تحری ۔ تنہی ۔ انہوں نے ۔ انتر ۔ دلمیں۔ ارادھیا۔ بسائیا۔ بخیلی ۔ بغض ۔ برائی ۔ چغل خوری ۔ انگ ۔ ساتھ ۔ مددگار۔ (1 ) نو ار نہارا۔ دور کرنے کی توفیق رکھنے والا (1) دھیائے ۔ دھیان کر (1) رہاؤ۔ بھگت۔ الہٰی عشق۔ بھنڈار۔ ذخیرہ۔ خزانہ ۔ ریس۔ برابری ۔ ہلت پلت۔ ہر دو عالموں میں۔ موہ کار۔ منہ کالا (2) بھگت ۔ الہٰی عاشق۔ سیوکا۔ خدمتگار۔ نندک ۔ برائی کرنے والے کے ۔ چھار۔ راکھ ۔ سوآہ (3) درتی ۔ برتاؤ۔ وچار۔ خیال۔ سمجھ ۔ سویک بھائے نستار۔ خدمتگار رویہ سے کامیابی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل خدا کو یاد کیا کر الہٰی یاد سے دیرینہ عذآب مٹانے والا ہے خدا (1) رہاؤ۔ وہی دلمیں یاد خدا کو گرتے ہیں جن کے اعمالنامے تحریر پہلے خدا کا کیا ہوتا ہے ۔ ان کی برائی بدگوئی اور بخیلی کوئی کیا کریگا جس کا مددگار اور ساتھی ہو کار ساز کرتار (1) جن کو بارگاہ الہٰی سے ہو عنایت عابدوں و رپریمیوں کو خزانے عبادت کے اور آب حیات کے جن سے زندگی روحانی واخلاقی ہوجاتی ہے ۔ ان کی برابری نا اہل اور بیوقوف کر سکتے ہیں ان کا دو علام میں رخ سیاہ ہوتا ہے (2) وہی ہیں الہٰی پریمی اور عابد جن کو پیار ہے الہٰی نام سے ان کی خدمت سے ملاپ الہٰی ہوتا ہےا ور بد گوئی کرنے والے کے سر میں راکھ پڑتی ہے (3) وہی جانتا ہے اسے جس کے ساتھ برتاؤ ہوتا ہے ۔ مرشد عالم نانک سے پوچھواور کرو خیال کہ آغاز عالم سے کسی نے حسد بغض کینہ سے کسی نے نہیں پائیا خدمت اور پیار سے ہی کامیابی نصیب ہوتی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
جِتھےَ ہرِ آرادھیِئےَ تِتھےَ ہرِ مِتُ سہائیِ ॥
گُر کِرپا تے ہرِ منِ ۄسےَہورتُبِدھِلئِیان جائیِ ॥੧॥
ہرِ دھنُ سنّچیِئےَ بھائیِ ॥
جِ ہلتِ پلتِ ہرِ ہوءِ سکھائیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
ستسنّگتیِ سنّگِ ہرِ دھنُ کھٹیِئےَ ہور تھےَ ہورتُ اُپاءِ ہرِ دھنُ کِتےَ ن پائیِ ॥
ہرِ رتنےَ کا ۄاپاریِیاہرِرتندھنُۄِہاجھے کچےَ کے ۄاپاریِۓۄاکِہرِدھنُلئِیا ن جائیِ ॥੨॥
ہرِ دھنُ رتنُ جۄیہرُمانھکُہرِدھنےَنالِانّم٘رِتۄیلےَۄتےَہرِبھگتیِہرِلِۄلائیِ॥
ہرِ دھنُ انّم٘رِتۄیلےَۄتےَکابیِجِیابھگتکھاءِکھرچِرہے نِکھُٹےَ ناہیِ ॥
ہلتِ پلتِ ہرِ دھنےَ کیِ بھگتا کءُ مِلیِ ۄڈِیائیِ॥੩॥
ہرِ دھنُ نِربھءُ سدا سدا استھِرُ ہےَ ساچا اِہُ ہرِ دھنُ اگنیِ تسکرےَ پانھیِئےَ جمدوُتےَ کِسےَ کا گۄائِیانجائیِ॥
ہرِ دھن کءُ اُچکا نیڑِ ن آۄئیِجمُجاگاتیِڈنّڈُنلگائیِ॥੪॥
ساکتیِ پاپ کرِ کےَ بِکھِیا دھنُ سنّچِیا تِنا اِک ۄِکھنالِنجائیِ॥
ہلتےَ ۄِچِساکتدُہیلےبھۓہتھہُچھُڑکِگئِیااگےَپلتِساکتُہرِدرگہڈھوئیِنپائیِ॥੫॥
اِسُ ہرِ دھن کا ساہُ ہرِ آپِ ہےَ سنّتہُ جِس نو دےءِ سُ ہرِ دھنُ لدِ چلائیِ ॥
اِسُ ہرِ دھنےَ کا توٹا کدے ن آۄئیِجننانککءُگُرِسوجھیِپائیِ॥੬॥੩॥੧੦॥
لفظی معنی :
مت۔ دوست۔ سہائی۔ مددگار۔ ہورت۔ دوسرے ۔ بدھ ۔ طریقے (1) سنچیئے ۔ اکھٹا کریں۔ ہلت پلت ۔ اس جہان میں اور اگلے جہان میں۔ سکھائی ۔ ساتھی ۔ مددگار (1) رہاؤ۔ ست سنگتی ۔ سچی صحبت والے ۔ سنگ ۔ ساتھ۔ کھٹیئے ۔ کامئیں ۔ ہورتھے ۔ کسی اور جگہ ۔ ہورت اپائے ۔ دوسری کوششوںس ے ۔ کتے ۔ کہیں۔ واپاریا ۔ سوداگر ۔ بیوپاری ۔ وہاجھے ۔ خریدتا ہے ۔ واک ۔ زبانی باتوں سے (2) انمرت ویلے ۔ علے الصبح۔ ویلے وتے ۔ موزوں وقت۔ بھگت۔ الہٰی عاشق۔ وڈیائی ۔ عطمت (3) نربھؤ۔ بیخوف۔ سدا سدا ۔ ہمیشہ ۔ استھر ۔ صدیوی ۔ مستقل۔ دائمی ۔ ساچا۔ سچا ۔ صدیوی ۔ اگنی ۔ آگ ۔ تسکر ۔ چور۔ ڈاو۔ جمروتے ۔ فرشتہ موت۔ جم جاگاتی ۔ محصول لینے والا۔ ڈنڈ۔ سزا۔ جرمانہ () ساکتی ۔ مادہ پرست۔ وکھیا دھن۔ دنیاوی دؤلت ۔ سنچیا۔ اکھٹا کیا۔ وکھ ۔ قدم ۔ ہلتے ۔ اس جہان میں۔ دہیلے ۔ دکھی ۔ پلت۔ اگلے جہان میں۔ ڈہوئی ۔ آصرا۔ ہر در گیہہ۔ دربار الہٰی (5) ساہو۔ شاہوکار ۔ سنتہو۔ اے روحانی رہبرؤ۔ تٹا ۔ کمی ۔ کدے ۔ کبھی ۔ گر۔ سوجھی ۔ مرشد نے سمجھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسانوں الہٰی سر مایہ اکھٹا کرو جو ہر دو عالموں میں مددگار ہوگا (1) راہو۔ جہاں ہوگی یادخدا وہاں ہو مددگار اور دوست رحمت مرشد سے خدا دل میں بستا ہے اور کوئی طریقہ نہیں اسے پانے کا۔ سچے ساتھیوں کے ساتھ الہٰی دولت کمائی جاتی ہے کسی دوسری جگہ اور کوشش سے الہٰی سرمایہ حاصل ہوتا نہیں۔ الہٰی قیمتی ہیروں کا سوداگر الہٰی قیمتی ہیرے مراد وصف خریدتا ہے اور خادم مال ک بیوپاری زبانی جمع خرچ سے الہٰی دولت حاصل نہیں کر سکتے (2) الہٰی دولت ہیروں جواہرات متیوں جیسا بیش بہا قیمتی ہے ۔ الہٰی عاشق علے الصبح موزوں وقت پر اسکی یاد وریاض کا بیج بوتے ہیںا ور موزوں وقت پر لویا ہوا بیج کا پھل خود کھاتے اور خرچتے ہیں اور تقسیم بھی کرتے ہیں اسمیں کمی واقع نہیں ہوتی اور عاشقان الہٰی عابد وریاض کا راس الہٰی سرمایہ کی بدولت ہر دو عالموں میں عطمت و عزت پاتے ہیں (2) الہٰی دولت کو کسی قسم کا خووف وخطر نہیں صدیوی اور مستقل ہے ۔ آگ جلا سکتی نہیں چور ڈاکو لوٹ سکتا نہین۔ پانی ختم نہیں ۔ موت اسے آتی نہیں ۔محصولیا سزا دے سکتا نہیں محصول لے سکتا نہیں (4) مادہ پرستوں کی ظلم و ستم اور گناہوں سے اکھٹا کیا ہوا ۔ سرمائیا ساتھ جاتا نہیں۔ قدم۔ اس علام میں مادہ پرست عذآب پاتا ہے ۔ سرامیہ دنیاوی ہاتھ سے چھن جاتا ہے اگلے جہان میں بارگا الہٰی میں اسرا ملتا نہیں (5) اس الہٰی دولت کا شاہور کار ہے خود خدا جیسے دیتا ہے خدا وہ اپنے ساتھ لیجاتا ہے ۔ اس دولت میں کھی کمی واقع ہوتی نہیں۔ خادم نانک کو مرشد نے یہ سمجھائیا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
جِس نو ہرِ سُپ٘رسنّنُہوءِسو ہرِ گُنھا رۄےَسوبھگتُسوپرۄانُ॥
تِس کیِ مہِما کِیا ۄرنیِئےَجِسکےَہِردےَۄسِیاہرِپُرکھُبھگۄانُ॥੧॥
گوۄِنّدگُنھگائیِئےَجیِءُلاءِستِگُروُنالِدھِیانُ॥੧॥ رہاءُ ॥
سو ستِگُروُ سا سیۄاستِگُرکیِ سپھل ہےَ جِس تے پائیِئےَ پرم نِدھانُ ॥
جو دوُجےَ بھاءِ ساکت کامنا ارتھِ دُرگنّدھ سریۄدےسونِہپھلسبھُاگِیانُ॥੨॥
جِس نو پرتیِتِ ہوۄےَتِسکاگاۄِیاتھاءِپۄےَسوپاۄےَدرگہمانُ॥
جو بِنُ پرتیِتیِ کپٹیِ کوُڑیِ کوُڑیِ اکھیِ میِٹدے اُن کا اُترِ جائِگا جھوُٹھُ گُمانُ ॥੩॥
جیتا جیِءُ پِنّڈُ سبھُ تیرا توُنّ انّترجامیِ پُرکھُ بھگۄانُ॥
داسنِ داسُ کہےَ جنُ نانکُ جیہا توُنّ کرائِہِ تیہا ہءُ کریِ ۄکھِیانُ॥੪॥੪॥੧੧॥
لفظی معنی :
سوپرسن۔ مکمل خوش۔ گن روے ۔ اسکے اوصاف کہتا ہے ۔ سوبھگت سوپروان ۔ وہی الہٰی عاشق اور قبول ہوتا ہے مہما ۔ معظمت۔ بزرگی ۔ درنیئے ۔ بیان کریں۔ بھگوان ۔ خدا ۔ تقدیر ساز (1) جیؤ لائے ۔د لی پیار سے ۔ ستگر نال ۔ سچے مرشد کے ساتھ ہوکر ( 1) رہاؤ۔ ساسیوا۔ وہ خدمت ۔ سھپل ۔ برآور۔ کامیاب۔ پرم ندھان ۔ اونچا خزناہ ۔ دوجے بھائے ۔ دوسری محبت میں ۔ ساکت کا منا ارتھ ۔ مادہ پرست کی خواہشات ۔ ارتھ ۔ سرامیہ۔ درگند۔ بدبو ۔ سریودے ۔ خدمت کرنا مراد پیدا کرنا ۔ نہفل۔ بیکار۔ بلا مطلب ۔ اگیان ۔ لا علمی ۔ جہات (2) ۔ پرتیت۔ یقین ۔ تھاے پوے ۔ قبول یا منظور ہوتا ہے ۔ درگیہہ مان۔ دریا ر میں وقار عزت۔ بن پرتیتی ۔ بغیر یقین واثق۔ جھوٹھ گمان۔ جوھٹا تکبر (3) جیؤ پنڈ۔ دل وجان۔ روح و جسم۔ انتر جامی ۔ راز دلی جاننے والا۔ داسن داس۔ خادموں کا خادم۔ وکھیان ۔تشریح بیان ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچے مرشد کے ساتھ توجہ اور دھیان سے خدا کے اوساف کی صفت صلاح ریں (1) رہاؤ۔ جس پر خدا نہایت خوش ہوتا ہے وہ الہٰی اوصاف یاد کرتا ہے اسی کی اور وہی عشق و پیار قبول ہوتا ہے ۔ اسکی عطمت اور بزرگی کیا بیان کیجائے ۔ جس کے دل میں بستا ہے خدا۔ وہ سچا مرشد اور سچے مرشد کی وہ خدمت کامیاب برآور ہے جس سے بلند پایہ کا خزانہ ملتاہ ے ۔ دوسری محبت مادہ پرست کی دنیاوی دولت کی خواہش بدبو کی خدمت ہے جو بیکار اور جہالت و لاعلمی ہے (2) جو بغیر یقین واثق جوھٹی موٹی انکھیں بند کرتے ہیں۔ ان کا جھوٹا شک و شہبات آخر مٹ جاتا ہے اور تکبر ختم ہوجاتا ہے جسے یقین واثق و کامل ہوتا ہے ان کی صفت صلاح قبول ہوتی ہے الہٰی درگیہہ میں عزت و وقار پاتا ہے اے خدا یہ روح اور جسم تیرا ہی عنایت کردہ اور تیرا ہے تو سب کے دلی راز جاننے والا ہے ۔ غلاموں کے خادموں کے خادم نانک وہی کہتا ہے جو تو کہلاتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪ گھرُ ੭
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
تیرے کۄنکۄنگُنھکہِکہِگاۄاتوُساہِبگُنھیِنِدھانا॥
تُمریِ مہِما برنِ ن ساکءُ توُنّ ٹھاکُر اوُچ بھگۄانا॥੧॥
مےَ ہرِ ہرِ نامُ دھر سوئیِ ॥
جِءُ بھاۄےَتِءُراکھُمیرےساہِبمےَتُجھبِنُاۄرُنکوئیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
مےَ تانھُ دیِبانھُ توُہےَ میرے سُیامیِ مےَ تُدھُ آگےَ ارداسِ ॥
مےَ ہورُ تھاءُ ناہیِ جِسُ پہِ کرءُ بیننّتیِ میرا دُکھُ سُکھُ تُجھ ہیِ پاسِ ॥੨॥
ۄِچےدھرتیِۄِچےپانھیِۄِچِکاسٹاگنِدھریِجےَ॥
بکریِ سِنّگھُ اِکتےَ تھاءِ راکھے من ہرِ جپِ بھ٘رمُبھءُدوُرِکیِجےَ॥੩॥
ہرِ کیِ ۄڈِیائیِدیکھہُسنّتہُہرِنِمانھِیامانھُدیۄاۓ॥
جِءُ دھرتیِ چرنھ تلے تے اوُپرِ آۄےَتِءُنانکسادھجناجگتُآنھِسبھُپیَریِپاۓ॥੪॥੧॥੧੨॥
لفظی معنی :
کون کون۔ کونسے کونسے ۔ صاحب۔ مالک۔ گنی ندھانا۔ اوصاف کا خزانہ ۔ مہما ۔ عظمت۔ بزرگی ۔ برن۔ بیان۔ اوچ۔ بلند۔ بھگوانا۔ خدا (1) نام دھر سوئی۔ الہٰی نام کا آسرا۔ رکاھ ۔ بچاؤ(1) رہاؤ۔ تان ۔ طاقت ۔ قوت ۔ دیبان۔ سہارا۔ ارداس۔ گذارش ۔ عرض ۔ پاسے ۔ تیرے ساہمنے (2) کاسٹ۔ لکڑی سنگھ شیر۔ اکت تھائے ۔ ایک جگہ ۔ بھرم بھؤ۔ خوف و شک و شہبات (3) تلے ۔ نیچے ۔ سادھ جنا۔ پاکدامن خادم۔ جگت۔ جہان علام۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا مجھے تیرے نام کا ہی آسرا ہے ۔ جیسے تیری رضا ہے میں تیرے بغیر کچھ بھی نہین (1) رہاؤ۔
اے میرے آقا اوصاف کے خزانوں کا مالک ہے میرے کون کون سے اوصاف کے تعریف اور حمدوثناہ کرؤ ں تیری عظمت و حشمت بیان نہیں ہو سکتی تو بلند رتبے والا تقدیر ہر ساز ہے (1) اے خدا مجھے تیرے نام کا آسرا ہے ۔ اے خدا تو ہی توانائی اور طاقت ہے تو ہی صلاحکار اور آقا ہے اور میری تیرے پاس ہی عرض و گذارش ہے میرے لئے کوئی دوسری جگہ نہیں جس پاس عرض و گذارش کروں میرا عذآب و اسائش تیرے پاس ہی ہے (2) اے انسان۔ اس زمین میں پانی ہے اور پانی میں زمین اور لکڑٰ میں آگ ہے ۔ جیسے بکری اور شیر ایک جگہ رکھے ہوئے ہیں۔ اے دل الہٰی ریاض کرکے تمام وہم وگمان اور خؤف دور کر (3) اے مذہبی و روحانی رہبرو ( سنتہوں ) الہٰی عظمت کی طرف دھیان کرؤ کر وہ بے وقاروں کو وقار اور عزت دلاتاہے ۔ اے نانک ۔ جیسے زمین پاؤں کے نیچے سے اوپر آجاتی ہے ۔ ایسے ہی پاکدامن خادمان خلق کے خدا سارے علام کو ان کے پاؤں ڈالتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
توُنّ کرتا سبھُ کِچھُ آپے جانھہِ کِیا تُدھُ پہِ آکھِ سُنھائیِئےَ ॥
بُرا بھلا تُدھُ سبھُ کِچھُ سوُجھےَ جیہا کو کرے تیہا کو پائیِئےَ ॥੧॥
میرے ساہِب توُنّ انّتر کیِ بِدھِ جانھہِ ॥
بُرا بھلا تُدھُ سبھُ کِچھُ سوُجھےَ تُدھُ بھاۄےَتِۄےَبُلاۄہِ॥੧॥ رہاءُ ॥
سبھُ موہُ مائِیا سریِرُ ہرِ کیِیا ۄِچِدیہیِمانُکھبھگتِکرائیِ॥
اِکنا ستِگُرُ میلِ سُکھُ دیۄہِاِکِمنمُکھِدھنّدھُپِٹائیِ॥੨॥
سبھُ کو تیرا توُنّ سبھنا کا میرے کرتے تُدھُ سبھنا سِرِ لِکھِیا لیکھُ ॥
جیہیِ توُنّ ندرِ کرہِ تیہا کو ہوۄےَبِنُندریِناہیِکوبھیکھُ॥੩॥
تیریِ ۄڈِیائیِتوُنّہےَجانھہِسبھتُدھنونِتدھِیاۓ॥
جِس نو تُدھُ بھاۄےَتِسنوتوُنّمیلہِجننانکسوتھاءِپاۓ॥੪॥੨॥੧੩॥
لفظی معنی :
کرتا ۔ کرتار۔ کارساز۔ سب کچھ ۔ ہر بات۔ برابھلا ۔ نیک و بد۔ جانے ۔ تمیز سمجھنا ۔ سوجھے ۔ سمجھ (1) انتر۔ اندرونی ۔ تدھ بھاوے ۔ جو تو چاہتا ہے (1 رہاؤ۔ لیکھ ۔ حساب ۔ ندر۔ نگاہ ۔ موہ ۔ محبت۔ مائیا۔ دنیاوی سرامیہ۔ بھگت ۔ الہٰی پیار۔ دھند پٹائی ۔ دنیاوی کاروبار میں ذلیل وخوار (2) بھیکھ ۔مذہبی شکل وصورت۔ فقہ (3) سوتھائے پائے ۔ ٹھکانہ پاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے آقا تو انسان کے اندرونی راز جانتااور سمجھتا ہے ۔ تجھے نیک و بد کی ساری سمجھ ہے ۔ جیسا تو چاہتا ہے ویسا اسکے نام سے بلاتا ہے ۔ رہاؤ۔ اے خدا تجھے کہہ سانئیں تو کارساکرتار علام کو پیدا کرنے والا ہے تجھے ہر طرح کی سمجھ ہے ۔ تجھے ہر طرح کی نیک و بد کی تمیز ہے ۔ جیسے کسی کے اعملا ہیں ویسا انجام پاتا ہے (1) دنیاوی دولت سے محبت خود خدا نے پیاد کیا ہے ۔ اور ہر جسم اسی نے پیدا کیا ہے اور عبادت وریاضت و بندگی بھی خود ہی کراتا ہے ۔ ایک کو اپنی سچے مرشد سے ملا کر روحانی سکون دلاتا ہے اور ایک خودی پسندی دنیاوی کاروبار میں ذلیل وخؤار ہوتے ہیں (2) اے کارساز کرتار تو سب کا مالک ہے اور سارے جادنار تیرے پیدا کئے ہوئے ہیں اور تو نے سب کا اعمالنامہ تحریر کیا ہوا ہے جس پر تیری نظر عنایت و شفقت ہوتی ہے ویسا وہ ہوجاتا ہے بغیر تیری نظر کوئی نیک و بد نہیں ہو سکتا (3) خوآہ سارے تجھ میں دھیان لگاتے ہیں مگر اپنی عظمت و حشمت اور قدروقیمت تو ہی جانتا ہے ۔ جسے تو چاہتا ہے اپنا ملاپ عنایت کرتا ہے ۔ اے نانک وہی ٹھکانہ پاتا ہے اور مقبول ہو جاتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
جِن کےَ انّترِ ۄسِیامیراہرِہرِتِنکےسبھِروگگۄاۓ॥
تے مُکت بھۓجِنہرِنامُدھِیائِیاتِنپۄِتُپرمپدُپاۓ॥੧॥
میرے رام ہرِ جن آروگ بھۓ॥
گُر بچنیِ جِنا جپِیا میرا ہرِ ہرِ تِن کے ہئُمےَ روگ گۓ॥੧॥ رہاءُ ॥
ب٘رہمابِسنُمہادیءُت٘رےَگُنھروگیِۄِچِہئُمےَکارکمائیِ॥
جِنِ کیِۓتِسہِنچیتہِبپُڑےہرِگُرمُکھِسوجھیِپائیِ॥੨॥
ہئُمےَ روگِ سبھُ جگتُ بِیاپِیا تِن کءُ جنم مرنھ دُکھُ بھاریِ ॥
گُر پرسادیِ کو ۄِرلاچھوُٹےَتِسُجنکءُہءُبلِہاریِ॥੩॥
جِنِ سِسٹِ ساجیِ سوئیِ ہرِ جانھےَ تا کا روُپُ اپارو ॥
نانک آپے ۄیکھِہرِبِگسےَگُرمُکھِب٘رہمبیِچارو॥੪॥੩॥੧੪॥
لفظی معنی :
انتر۔ دل میں۔ر وگ۔ بیماریاں۔ گوائے ۔ مٹائے ۔ مکت ۔ آزاد۔ نجات۔ نام دھیائیا۔ نام یعنی سچ حق وحقیقت میں اپنی توجہ مبذول کی لگائی ۔ پوت۔ پاک ۔ مقدس۔ پرم پد۔ بلند رتبے ۔ بلند مقام (1) برہما۔ بشن۔ مہادیؤ ۔ ترے گن روگی ۔ تینوں دنیاوی حکومت میں تقی ۔ ستو ۔ طاقت یا لالچ کی بیماری میں گرفتار ہرے ۔ جن کئے جس نے پیدا کیا ۔ تیسہہ۔ اسے ۔ چیتہہ۔ یاد کیا۔ بپڑے ۔ بارے ۔ گورمکھ ۔ مرشد کے وسیلے سے سوجہی ۔ سمجھ (2) ہونمے ۔ خودی ۔ خود پسندی ۔ دیاپیا۔ مبتلا ۔ اثر پذیر۔ جنم مرن۔ تناسخ ۔ دکھ عذاب۔ تکلیف ۔ مسٰبت۔ گر پرسادی ۔ رحمت مرشد سے ۔ ورلا ۔ شاذ و نادر ۔ چھوٹے ۔ نجات (3) سر شٹ ساجی ۔ عالم پیدا کیا۔ روپ اپارو۔ بیشمار ۔ خوبصورت۔ دسے ۔ خوش ہوتا ہے ۔ بہرم وچارو۔ خدا کو سمجھو۔ خیال کرو ۔ سوچو۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے خدا خادمان خدا تندرست ہوئے ۔ اے خدا نا کی خودی کی بیماری ختم ہوئی جنہوں نے کلام پر مرشد پر عمل کرکے ریاض کی (1) رہاؤ۔ جن کے دل میں خدا بسا ان کی تمام بیماریاں مٹ گئیں۔ انہوں نے نجات پائی ۔ جنہوں نے الہٰی نام میں دھیان دیا وہ پاک و مقدس ہوئے ۔ اور بلند روحانی رتبے حاصل کئے (1) برہما وشنو اور مہادیو دنیاوی تین اوصا ف پر مشتمل سرمائے میں محبوس رہے اور خودی میں ہی کام کئے ۔ جس خدا نے انہیں پیدا کیا اسکی عبادتاطاعت وریاضت نہ کی بچاروں نے ۔ الہٰی سمجھ مرشد سے ہی ملتی ہے (2) ساراعالم خودی کی مرض میں مبتلا ہے اور تناسخ کا بھاری عذآب پاتا ہے ۔ رحمت مرشد کسی کو ہینجات حاصل ہوتی ہے ۔ میں اس پر قربان ہوں (3) جس نے یہ عالم پیدا کیا وہ سمجھتا ہے ۔ اسکی شکل وصورت عظمت و حشمت اور قدرقیمت اسکی ہی معلوم ہے اے نانک۔ وہ اپنے آپ کو دیکھ کر خود ہی خوش ہو رہا ہے مرشد کے وسیلے اور ذرائع سے ہی اسکی اور اسکے اوساف کی سمجھ آتی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੪॥
کیِتا کرنھا سرب رجائیِ کِچھُ کیِچےَ جے کرِ سکیِئےَ ॥
آپنھا کیِتا کِچھوُ ن ہوۄےَجِءُہرِبھاۄےَتِءُرکھیِئےَ॥੧॥
میرے ہرِ جیِءُ سبھُ کو تیرےَ ۄسِ॥
اسا جورُ ناہیِ جے کِچھُ کرِ ہم ساکہ جِءُ بھاۄےَتِۄےَبکھسِ॥੧॥ رہاءُ ॥
سبھُ جیِءُ پِنّڈُ دیِیا تُدھُ آپے تُدھُ آپے کارےَ لائِیا ॥
جیہا توُنّ ہُکمُ کرہِ تیہے کو کرم کماۄےَجیہاتُدھُدھُرِلِکھِپائِیا॥੨॥
پنّچ تتُ کرِ تُدھُ س٘رِسٹِسبھساجیِکوئیِچھیۄاکرِءُجےکِچھُکیِتاہوۄےَ॥
اِکنا ستِگُرُ میلِ توُنّ بُجھاۄہِ اِکِ منمُکھِ کرہِ سِ روۄےَ॥੩॥
ہرِ کیِ ۄڈِیائیِہءُآکھِنساکاہءُموُرکھُمُگدھُنیِچانھُ॥
جن نانک کءُ ہرِ بکھسِ لےَ میرے سُیامیِ سرنھاگتِ پئِیا اجانھُ ॥੪॥੪॥੧੫॥੨੪॥
لفظی معنی :
سرب رجائی ۔ سرب رضائی ۔ سارے رضا سے ۔ الہٰی حکم کے مطابق۔ کچھ کیچے ۔ کچھ کریں۔ جے کر سکئے ۔ اگر کرنے کی توفیق ہو۔ بھاوے ۔ رضآ ۔ راضی ہو (1) وس۔ زیر توفیق ۔ زیر اکتیارات۔ زور ۔ طاقت۔ جیؤ بھاوے ۔ جیسے تیری رضا۔ بخش۔ عنیات کر (1) رہاؤ۔ جیؤ ۔ روح۔ پنڈ ۔ جسم۔ کارے ۔ کام ۔ کرم اعمال۔ دھر لکھیا۔ بارگاہ خدا سے تحریر ہے (2) پنچ تت۔ پانچ دیات ۔ ہوا۔ پانی ۔ آگ۔ زمین اور آسمان ۔ سر شٹ۔ جہان ۔ عالم ۔ دنیا۔ ساجی ۔ ساری ۔ پیدا کی ۔ بجھادیہہ۔ سمجھاتا ہے ۔ منمکہہ۔ خودی پسند۔ کریہہ۔ تو کرتا ہے ۔ سے روہیہہ۔ وہ روتا ہے (3) وڈیائی ۔ بلندی ۔ عظمت۔ بزرگی ۔ مورکھ ۔ بیوقوف۔ مگدھ ۔ جاہل۔ نیچان ۔ کمینہ ۔ بخس۔ معاف کر۔ سر ناگت ۔ پشت پناہ۔ اجان۔ نااہل۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے خدا۔ ہر بشر تیرے زیر اختیار ات رات ہے ۔ ہمارے پاس کوئی طاقت نہیں کے تیرے بغیر کچھ کر سکیں۔ اے خدا جیسے تیری رضا ہے کرم فرمائی کیجیئے (1) رہاؤ۔ جو کچھ ہوا ہے ہو رہا ہے سارا راضائے الہٰی سے ہو رہا ہے ۔ کچھ کریں اگرتوفیق ہو۔ ہمارے کرنے سے کچھ ہو نہیں ہو سکتا جیسے تیری رضا و رغبت ہے اسی طرح رکھ (1) یہ روح و جسم تیرا ہی عنایت کردہ ہے اور تو نے کام لگائیا ہے ۔ جیسا تیرا فرمان ہے ویسا ہی کوئی کام کرتا ہے جیسا تیرا تیری بارگاہ سے تحریر ہے (2) پانچ مادایت زمین آسمان ہوا پانی اور اگ سے یہ عالم پیدا کیا ہے ۔ بشرمینں کونسی طاقت ہے جو کچھ کر سکے اگر کچھ کر سکتا ہوں چھٹا مادہ پیدا کرکے دکھائے ایک کوسچے مرشد سے ملا کر روحانیت اور روحآنی زندگی بسر کرنے کی بابت سمجھتا ہے ایک کو خؤدی پسند بناتا ہے اور وہ روکر زندگی گذارتے ہیں (3) میں الہٰی عظمت اور صفت صلاح بیان نہیں کر سکتا میں بیوقوف اور جاہل کمینگی میں زندگی بسر کرنے والا ہوں اے خدا خادم نانک پر کرم و عنایت فرما میں نا اہل تیری پشت پناہ میں آئیا ہوں۔

راگُ سوُہیِ مہلا ੫ گھرُ ੧
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
باجیِگرِ جیَسے باجیِ پائیِ ॥
نانا روُپ بھیکھ دِکھلائیِ ॥
ساںگُ اُتارِ تھنّم٘ہ٘ہِئوپاسارا॥
تب ایکو ایکنّکارا ॥੧॥
کۄنروُپد٘رِسٹِئوبِنسائِئو॥
کتہِ گئِئو اُہُ کت تے آئِئو ॥੧॥ رہاءُ ॥
جل تے اوُٹھہِ انِک ترنّگا ॥
کنِک بھوُکھن کیِنے بہُ رنّگا ॥
بیِجُ بیِجِ دیکھِئو بہُ پرکارا ॥
پھل پاکے تے ایکنّکارا ॥੨॥
سہس گھٹا مہِ ایکُ آکاسُ ॥
گھٹ پھوُٹے تے اوہیِ پ٘رگاسُ॥
بھرم لوبھ موہ مائِیا ۄِکار॥
بھ٘رمچھوُٹے تے ایکنّکار ॥੩॥
اوہُ ابِناسیِ بِنست ناہیِ ॥
نا کو آۄےَناکوجاہیِ॥
گُرِ پوُرےَ ہئُمےَ ملُ دھوئیِ ॥
کہُ نانک میریِ پرم گتِ ہوئیِ ॥੪॥੧॥
لفظی معنی:
بازیگر ۔ کلا کار۔ سوآنگ ۔ یا بھیس بنانے والا ۔ بازی ۔ کھیل ۔ نانا روپ۔ بیشمار شکلیں۔ سوانگ ۔ اتار۔ جب وہ بناوٹ اتار دیتا ہے ۔ تھمیؤ پسار۔ جب اپنا کیا ہوا پھیلاؤ بند کر دیتا ہے تو وہ اکیلا رہ جاتا ہے ۔ مراد حقیقت باقی رہ جاتی ہے (1) کون روپ ۔ کون کون سی شکلیں۔ مراد بہت سے شکلیں۔ درسٹیؤ۔ دکھائیں۔ ونسایؤ۔ مٹادیں۔ کتیہہ۔ کہاں۔ کت ۔ کہاں (1) رہاؤ۔ ترنگا۔ لرہیں۔ کنک۔ سونا ۔ بھوکھن۔ زیور۔ کینے ۔ کئے ۔ بہورنگا۔ کئی رنگوں اور طریقوں سے ۔ بیج بیجؤ۔ بیج بوتے ہیں۔ بہو پرکار۔ بہت سی قسموں کے ۔ ایکنکار ۔ واحد (2) سہس ۔ ہزاروں۔ گھٹ ۔ گھڑے ۔ آکاس۔ عکس ۔ سایہ ۔ گھٹ پوٹے ۔ گھڑ ا ٹؤٹ جانے پر۔ وہی ۔ وہی ۔ پر گاس۔ روشی ۔ بھرم۔ شک شبہ ۔ لوبھ ۔ لالچ۔ موہ مائیا۔ دنیاوی دولت کی محبت۔ وکار۔ برائیاں ۔ بھرم ۔ چھوٹے ۔ جب ان سے نجات اور ان کا شک و شبہ دور وہئے ۔ تے اینکار ۔ تب الہٰی وحدت کا (دیدار کا ) دیدار ہوتا ہے ۔ یعنی واحد خدا باقی رہ جاتا ہے ۔ وہ لافناہ ہے فناہ نہیں ہوتا ۔ ابناسی ۔ دنست ناہی ۔ نہ کوآوے ۔ نہ کوئی آتا ہے ۔ نہ کو جاہی نہ ہی جاتا ہے ۔ گر پورے ۔ کامل مرشد۔ ہونمے مل۔ خودی کی پلیدی ۔ ناپاکیزگی ۔کھوئی۔ مٹائی ۔ پرم گٹ۔ روحانیت کا بلند رتبہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کتنی ہی شکلیں میں آتی ہے ۔ مٹ جاتی ہیںمعلوم نہیں ہوتا کہاں سے آئای کہاں چلا گیا (1) رہاؤ۔ ڈرامہ یا ناٹک دکھانے والا اپنا ناٹک دکھاتا ہے کئی قسم کی شلیں اور بھیس بد ل کر دکھلاتا اور پیش کرتا ہے ۔ مگر جب وہ اپنا وہ کیا بھیس اتار دیتا ہے تو اصلی شکل میں آجاتا ہے اس طرح سے یہ عالم مختلف قسم کی شلیوں اور صورتوں میں پیدا کیا ہے ۔ مگر قیامت کے بعد اصلی صورت میں واحد رہ جاتا ہے (1)
جیسے پانی سے بیشمار لہریں اُٹھی ہیں مگر آخر پانی ہوجاتی ہے ۔ سونے سے بہت سی قسم کے زیور بنائے جاتے ہیں آخر کار سونا ہی ہوتے ہیں۔ بیج بوئے جاتے ہیں اور کئی قسم کی شاخوں پتوں میں دکھائی دیتے ہیں مگر پھل پکنے کے بعد پھر اسی شکل میں بیج بن جاتے ہیں۔ اسطرح سے یہ عالم کا طرح طرح کا پھیلاؤ بوقت آخرت و قیمات حقیقت اور واحد خدا رہ جاتا ہے (2) جیسے پانی کے ہزاروں گھڑی میں عکس علیحدہ علیحدہ دکھائی دیتا ہے مگر جب گھڑا ٹوٹ جاتا ہے تو عکس واحد رہ جاتا ہے شک و شبہات لالچ دنیاوی دلوت کی محبت اور برائیاں کارن اور وجوہات میں جب ان کا وہم وگمان مٹ جاتا ہے تو انسان خدا سے یکسو ہوجاتا ہے انسان کا اپنا اور خدا کا پردہ ختم ہوکر یکسو ہو جاتا ہے (3) خدا لافناہ ہے ۔ نہ کوئی آتا ہے نہ جاتا ہے کامل مرشد اسکا بھید مٹاتا ہے ۔ اے نانک بتادے کہ اب میری راہ زندگی بلند رتبے والی روحانی ہوگئی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
کیِتا لوڑہِ سو پ٘ربھہوءِ॥
تُجھ بِنُ دوُجا ناہیِ کوءِ ॥
جو جنُ سیۄےتِسُپوُرنکاج॥
داس اپُنے کیِ راکھہُ لاج ॥੧॥
تیریِ سرنھِ پوُرن دئِیالا ॥
تُجھ بِنُ کۄنُکرےپ٘رتِپالا॥੧॥ رہاءُ ॥
جلِ تھلِ مہیِئلِ رہِیا بھرپوُرِ ॥
نِکٹِ ۄسےَناہیِپ٘ربھُدوُرِ॥
لوک پتیِیارےَ کچھوُ ن پائیِئےَ ॥
ساچِ لگےَ تا ہئُمےَ جائیِئےَ ॥੨॥
جِس نو لاءِ لۓسولاگےَ॥
گِیان رتنُ انّترِ تِسُ جاگےَ ॥
دُرمتِ جاءِ پرم پدُ پاۓ॥
گُر پرسادیِ نامُ دھِیاۓ॥੩॥
دُءِ کر جوڑِ کرءُ ارداسِ ॥
تُدھُ بھاۄےَتاآنھہِراسِ॥
کرِ کِرپا اپنیِ بھگتیِ لاءِ ॥
جن نانک پ٘ربھُسدادھِیاءِ॥੪॥੨॥
لفظی معنی:
کیتا لوڑیہہ ۔ جس سے کرنے کی ضرورت ہے ۔ جو جن سیویہہ۔ جو خدمت کرتا ہے ۔ تجھ بن ۔ تیرے بغیر ۔ لاج ۔ عزت۔ (1) تیری سرن ۔ تیری پشت پناہ۔ دیالا۔ مہربان ۔ جل۔ پانی ۔ تھل۔ زمین۔ مہیل۔ خلا یا آسمان۔ پرتپالا۔ پرورش۔ بھرپور ۔ مکمل طور پر ۔ پتیارے ۔ تسلی کرانے سے ۔ ساچ لگے ۔ حقیقت پر عمل (2) گیان رتن ۔ قیمتی علم۔ جاگے ۔ بیدار ہوئے ۔ روشن ہو۔ درمت ۔ بدعلقی ۔ برئے خیال۔ پرم پد۔ بلند رتبہ ۔ گر پر سادی ۔ رحمت مرشد سے ۔ نام دھیائے ۔ الہٰی نام ۔ سچ ۔ حق وحقیقت توجہ مبذول کرے ۔ دوئے کر جوڑ۔ دست بستہ۔ ہاتھ باندھ کر ۔ ارداس۔ عرض ۔گذارش۔ تدھ بھاوے ۔ تو چاہے ۔ راس۔ درست۔ ٹھیک۔ بھگتی ۔ محبت۔ پریم ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے مہربان تیری ہی پشت پناہی ہے تیرے بغیر کون رپورش کرنے والا ہے (1) رہاؤ۔ اے خدا تو جو چاہتا ہے وہی ہوتا ہے تیرے بغیر ایسی کوئی ہستی نہین۔ جو خدمت کرتا ہے اس کے کام کامیاب ہوتے ہیں اپنے خدمتگار کی عزت بچاؤ (1) اے خدا تو سمندر زمین اور آسامن میں مکمل طور ہپر بستا ہے ۔ نزدیک بستا ہے کہیں دور نہیں ۔ لوگوں کی تسلی کرانے سے کچھ حاصل نہیں ہوتا حقیقت اور سچ اپنانے سے خود مٹی ہے (2) اس میں وہی دھیان لگاتا ہے جسے خدا لگاتا ہے اور اسکے اندر قیمتی علم روشن ہوتا ہے بیداری پیدا ہوتی ہے ۔ برے خیالات اور بد عقلی ختم ہو جاتی ہے بلند رتبے پاتا ہے۔ رحمت مرشد سے الہٰی نام حق سچ اور حقیقت میں اپنا دھیان لگاتا ہے (3) ہاتھ باندھ کر گذارش کرتا ہوں۔ اگر تو چاہے تبھی کامیابی ملتی ہے ۔ مہربانی کرکے مجھ پنا ہ پریم پیار عنایت کر ۔ خادم نانک ہمیشہ یاد وریاض خدا کی کرتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
دھنُ سوہاگنِ جو پ٘ربھوُپچھانےَ॥
مانےَ ہُکمُ تجےَ ابھِمانےَ ॥
پ٘رِءسِءُراتیِرلیِیامانےَ॥੧॥
سُنِ سکھیِۓ پ٘ربھمِلنھنیِسانیِ॥
منُ تنُ ارپِ تجِ لاج لوکانیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
سکھیِ سہیلیِ کءُ سمجھاۄےَ॥
سوئیِ کماۄےَجوپ٘ربھبھاۄےَ॥
سا سوہاگنھِ انّکِ سماۄےَ॥੨॥
گربِ گہیلیِ مہلُ ن پاۄےَ॥
پھِرِ پچھُتاۄےَجبریَنھِبِہاۄےَ॥
کرمہیِنھِ منمُکھِ دُکھُ پاۄےَ॥੩॥
بِنءُ کریِ جے جانھا دوُرِ ॥
پ٘ربھُابِناسیِرہِیابھرپوُرِ॥
جنُ نانکُ گاۄےَدیکھِہدوُرِ॥੪॥੩॥
لفظی معنی:
دھن۔ قابل ستائش ۔ سوہاگن۔ خدا پرست۔ بچھانے ۔ جسے پہچان ہے ۔ حکم۔ فرمانے ۔ تجے ابھیمان۔ غرور چھوڑے ۔ پریہ ۔ پیارا ۔ راتی ۔ محو۔ رلیا۔ خوشی (1) سکھیئے ۔ ساتھی ۔ نسانی ۔ پہچان ۔ پربھ ملن ۔ الہٰی ملاپ ۔ من تن ارپ ۔ دل و جان بھینٹ ۔ تج چھوڑ کر ۔ لاج لوکانی ۔ لوک ۔ لاج ۔ لوگوں میں عزت (!) رہاؤ۔ سوئی کاموے ۔ وہی کرے ۔ جو پربھ بھاوے ۔ جو رضائے الہٰی ہو۔ انک ۔ گود (2) گربھ گہیلی ۔ مغرور۔ محل ۔ ٹھکانہ ۔ جب رین بہاوے ۔ جب رات گذر جاتی ہے ۔ کرم ہین ۔ بد قسمت۔ منمکہہ۔ خود پسندی (3) ابناسی ۔ لافنہا۔ حدور۔ حاضر ناظر
ترجمہ معہ تشریح:
اے ساتھی دوست الہٰی ملاپ کی پہچان سن۔ دل و جان بھینٹ کرکے دنیاوی عزت و آبرو چھوڑ دے ترک کر (1) رہاؤ۔ وہ خد پرست قابل ستائش ہے جسے پہچان خدا کی ہے فرمان و رضائے الہٰی میں رہتا ہے اور غرور ختم کر تا ہے ۔ اور پیارے کے ساتھ روحانی سکون پاتا ہے (1) اپنے ساتھی کو سمجھائے ۔ الہٰی رضا کے مطابق اعملا کرے وہ خدا رپست لاہٰی گود اور ملاپ میں محو ومجذوب رہتا ہے ۔ غرور میں محو م غرور انسان کو ٹھکانہ نیں ملتا منزل و مقصدو حاصل نہیں ہوتی ۔ جب زندگی کی رات موقعہ گذار جاتا ہے پچھتاتا ہے اور بد قسمت عذآب پاتا ہے (3) عرض یا گذارش تب ہی کروں اگر دو سمجھو یا خیال کروں۔ لافناہ خدا ہر جائی ۔ خادم نانک۔ اسے ساتھ اور حاضر ناظر دیکھ کر اسکی صفت صلاح کرتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گ٘رِہُۄسِگُرِکیِناہءُگھرکیِنارِ॥
دس داسیِ کرِ دیِنیِ بھتارِ ॥
سگل سمگ٘ریِمےَگھرکیِجوڑیِ ॥
آس پِیاسیِ پِر کءُ لوڑیِ ॥੧॥
کۄنکہاگُنکنّتپِیارے॥
سُگھڑ سروُپ دئِیال مُرارے ॥੧॥ رہاءُ ॥
ستُ سیِگارُ بھءُ انّجنُ پائِیا ॥
انّم٘رِتنامُتنّبولُمُکھِکھائِیا॥
کنّگن بست٘رگہنےبنے سُہاۄے॥
دھن سبھ سُکھ پاۄےَجاںپِرُگھرِآۄےَ॥੨॥
گُنھ کامنھ کرِ کنّتُ ریِجھائِیا ॥
ۄسِکرِلیِناگُرِبھرمُچُکائِیا॥
سبھ تے اوُچا منّدرُ میرا ॥
سبھ کامنھِ تِیاگیِ پ٘رِءُپ٘ریِتمُمیرا॥੩॥
پ٘رگٹِیاسوُرُجوتِاُجیِیارا॥
سیج ۄِچھائیِسردھاپارا॥
نۄرنّگلالُسیجراۄنھآئِیا॥
جن نانک پِر دھن مِلِ سُکھُ پائِیا ॥੪॥੪॥
لفظی معنی:
گریہہ۔ گھر یا زندیگ ۔ جسم۔ گھر کی نار۔ اپنے جسم کا مالک ۔ دس داسی ۔ دسوں اعضاجسمانی ۔ داسی ۔ میرے زیر فرامن۔ تابع۔ بھتار۔ خدا۔ سگل سمگری ۔ سارا سامان۔ سارے روحانی اوصاف ۔ آس۔ اُمید ۔ پر ۔ خدا۔ لوڑی ۔ تلاش (1) کنت ۔ خاوند مراد خدا۔ سگھڑ ۔ ہوشمند۔ دیال مہربان (1) رہاؤ۔ ست۔ سچ ۔ پاکدامنی ۔ سیگار۔ سجاوٹ۔ بھؤ۔ خوف۔ ادب۔ انجن۔ سرمیہ۔ انمرت نام ۔ آب حیات ۔ زندگی کو نیک بنانے والا نام سچ وحقیقت ۔ تنبول۔ پان۔ سہاوے ۔ سوہنے ۔ خوبصورت ۔ دھن۔ انسان ۔ جا پر گھر آوے ۔ جب خدا دل میں بستا ہے (2) گن ۔ اوصاف۔ ریجھائیا ۔ خوش کیا ۔ بھرم۔ وہم وگمان ۔ چکائیا ۔ مٹائیا۔ او چار مندر۔ بلند پایہ دل ۔ پریو پریتم ۔ پیار خدا (3) پرگٹیا سور۔ سورج چڑھا ۔ روشنی ہوئی ۔ مراد۔ ذہن پر نور ہوا۔ اجبار ۔ روشنی ۔ نور نگ ۔ نیئے ۔ جوش اور پریم والا۔ سچ ۔ دل ۔ پر دھن۔ انسان اور خدا سکھ سکون۔
ترجمہ معہ تشریح:
پیارےخدا کے کون کونسے اوصاف بینا کروں۔ با ہوش با اخلاق مہربان خدا کے (1) رہاؤ۔ خدا نے میرا اپنا جسم (مرشد ) اپنے زیر کر دیا اب میں اپنے آپ کا مالک ہوں الہٰی کرم و عنایت میرے دسوں اعضا میرے خدمتگار میرے زیر فرامن ہیں اور اب میرے اندر تمام ضروری اوصاف پیدا ہوگئے ہیں اور اب خدا کے دیدار کی با اُمید خواہش ہے (1) اب سچ اور پاکدامنی سے اپنے آپے کو سجا اور بناؤ شنگار کر لیا ہے ۔ اور آب حیات نام سچ حق وحقیقت کو اپنے ذہن نشین کر لیا جس سے زندگی روحانیت پرست بن جاتی ہے ۔ اور اب اوصاف کے زیوروں اور کپڑوں سے سج اور خوبصور ت ہوگیا ہے ۔ اگر دلمیں بستا ہو تو تمام آرام و آسائش حاصل ہیں (2) اوصاف سے خدا خوش ہوتا ہے انسان پر اسکی خوشنودی حاصل ہوتی ہے ۔ اوصاف سے ۔ خدا اسکا ہوجاتا ہے اوصاف سے ۔ مرشد نے وہم و گمان مٹا دیا اب بلند ترین ہوگیا ہے ذہن میرا اب تمام کا مناؤں وخوہشات چھوڑ کر خدا سے پیار ہوگیا ہے (3) ذہن الہٰی نور سے سر شار اور روشن ہو گیا ہے ۔ا ور میرے دل میں یقین واثق بیدار ہو گیا ہے ۔ اب ہر روز نئے بلوے نیئے جوش و خروش والا خدا میرا دلمیں بس گیا ہے ۔ اے خدمتگار نانک۔ انسان اور خدا کے ملاپ سےا نسان روحانی سکون پاتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
اُمکِئو ہیِءُ مِلن پ٘ربھتائیِ॥
کھوجت چرِئو دیکھءُ پ٘رِءجائیِ॥
سُنت سدیسرو پ٘رِءگ٘رِہِسیجۄِچھائیِ॥
بھ٘رمِبھ٘رمِآئِئوتءُندرِنپائیِ॥੧॥
کِن بِدھِ ہیِئرو دھیِرےَ نِمانو ॥
مِلُ ساجن ہءُ تُجھُ کُربانو ॥੧॥ رہاءُ ॥
ایکا سیج ۄِچھیِ دھن کنّتا ॥
دھن سوُتیِ پِرُ سد جاگنّتا ॥
پیِئو مدرو دھن متۄنّتا॥
دھن جاگےَ جے پِرُ بولنّتا ॥੨॥
بھئیِ نِراسیِ بہُتُ دِن لاگے ॥
دیس دِسنّتر مےَ سگلے جھاگے ॥
کھِنُ رہنُ ن پاۄءُبِنُپگپاگے ॥
ہوءِ ک٘رِپالُپ٘ربھمِلہسبھاگے॥੩॥
بھئِئو ک٘رِپالُستسنّگِمِلائِیا॥
بوُجھیِ تپتِ گھرہِ پِرُ پائِیا ॥
سگل سیِگار ہُنھِ مُجھہِ سُہائِیا ॥
کہُ نانک گُر بھرمُ چُکائِیا ॥੪॥
جہ دیکھا تہ پِرُ ہےَ بھائیِ ॥
کھول٘ہ٘ہِئوکپاٹُتامنُٹھہرائیِ॥੧॥ رہاءُ دوُجا ॥੫॥
لفظی معنی:
امکیؤ ہیؤ ۔ دل میں خوشی کا جوش ہوا۔ کھوجت۔ چریؤ۔ تلاش کرنے لگا۔ سنت سندیسرو۔ پیغام سن کے ۔ گریہہ سچ پچھائی ۔ دلمیں خواہش پیدا ہوئی ۔ بھرم بھرم آئیو ۔ بھٹک بھٹک آئے ۔ ندر نہ پائی ۔ نظر عنایت و شفقت حاصل نہ ہوئی (1) کن بدھ ۔ کس طریقے سے ۔ ہیرے ۔ دلمیں۔ دھیرے ۔ دھریج ۔ تحمل۔ نمانو۔ بے غیرت ۔ ساجن۔ دوست۔ ہؤ۔ میں۔ قربانو۔ صدقے (1) رہاؤ۔ ایکا سیج بچھی ۔ یکسوئی ہوئی ۔ دھن کنتا۔ متالشی اور خدا۔ دھن سوتی ۔ انسان دنیاوی دولت کی محبت میں خوابیدہ ہے ۔ غافل ہے ۔ پیؤ مدرو ۔ شراب پی کر ۔ متونتا۔ مدہوش۔ دھن جاگے ۔ انسان بیدار وہتا ہے ۔ پر بولتا ۔ اگر خدا بلاتا ہے (2) نراسی ۔ بے اُمید۔ دیس دسنتر۔ دیس بیدس ۔ سگلے جھاگے ۔ سارے ڈہونڈے ۔ بن پگ پاگے ۔ بغیر پشت پناہی ۔ سبھاگے ۔ خوش قسمت (3) ست سنگ ۔ سچا ساتھ ۔ تپت ۔ جلن ۔ گھر یہہ۔ دلمیں۔ مجھیہہ ۔ مجھے ۔ سہائیا۔ اچھا گا۔ بھرم چکائیا۔ شک و شبہ دور کیا (4 ) کپاٹ ۔ کواڑ۔ ٹھہرائی ۔ تحمل ملا۔ (1) رہاؤ دوجا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دوست مل میرے دل کو کیسے تسکین وتحمل حاصل ہو مجھ غریب کو میں قربان ہوں تجھ پر (!) رہاؤ۔ میرے دل میں تیرا پیغام سنتے ہی دل میں جوش و خرورش ور بلوتے پیدا ہوئے دلمیں الہٰی ملاپ کی خواہش پیدا ہوئی ۔ غاٖل انسان ہمیشہ دنیاوی دلوت کی محبت میں خوابیدہ رہتا ہے جبکہ خدا ہمیشہ بیدار رہتا ہے انسان اس طرح مدہوش رہتا ہے جیسے شرابی شراب میں مدہوش ہوتا ہے ۔ اسنان تبھی بیدار ہوتاہے جب خدا بیدار کرتا ہے (2) کافی عرصے سے جگہ بجگہ تارش کرکے پھر پھر کے کہیں نہیںملانا امید اور مایوس ہوگیا ہوں اسکی پشت پناہی کے بغیر تھوڑے سے وقفے کے لئے بھی چین و تسکین حاصل نہیں۔ التہ اگر وہ خود مہربان ہو تو خوش قسمتیسے مل جائے (3) جب مہربان ہوتا ہے سچا ساتھ ملا دے تو ذہی کوفت ختم ہوجاتی ہے اور دل یں یہ ملاپ و دیدار ہو جاتا ہے اب میرا اوصاف سےا پنےآپ کی ہوئی سجاوٹ و سنگار اچھا لگنے لگا (4) اے نانک بتادے ۔ کہ مرشد نے وہم و گمان مٹا دیا (4) جدھر جاتی ہے نظر خدا دیکھتا ہوں۔ ذہن کے کھلے دروازے دل کو ملا تحمل مستقل مزاج ہوگیا ہوں۔ رہاؤ۔ دوجا

سوُہیِ مہلا ੫॥
کِیا گُنھ تیرے سارِ سم٘ہ٘ہالیِموہِنِرگُنکےداتارے॥
بےَ کھریِدُ کِیا کرے چتُرائیِ اِہُ جیِءُ پِنّڈُ سبھُ تھارے ॥੧॥
لال رنّگیِلے پ٘ریِتممنموہنتیرےدرسنکءُہمبارے॥੧॥ رہاءُ ॥
پ٘ربھُداتاموہِدیِنُبھیکھاریِتُم٘ہ٘ہسداسدااُپکارے॥
سو کِچھُ ناہیِ جِ مےَ تے ہوۄےَمیرےٹھاکُراگماپارے॥੨॥
کِیا سیۄکماۄءُ کِیا کہِ ریِجھاۄءُبِدھِکِتُپاۄءُدرسارے॥
مِتِ نہیِ پائیِئےَ انّتُ ن لہیِئےَ منُ ترسےَ چرنارے ॥੩॥
پاۄءُدانُڈھیِٹھُہوءِماگءُمُکھِلاگےَسنّترینارے॥
جن نانک کءُ گُرِ کِرپا دھاریِ پ٘ربھِہاتھدےءِ نِستارے ॥੪॥੬॥
لفظی معنی:
سار۔ یاد کر ۔ سمالی ۔ بساؤں۔ دلمیں۔ نرگن۔ بے اوصاف ۔ داتا۔ سخی۔ بیعہ خڑید قیمتاً خریدا ہوا۔ چترائی۔ چالاکی ۔ دہوکا ۔ جیؤ۔ روح ۔ زندگی ۔ پنڈ۔ جسم۔ تھارے ۔ تیرے (1) لال رنگینے ۔ خوشباش البیلے ۔ پرتیم۔ یرے پیارے ۔ منموہن ۔دل کو اپنی محبت کی گرفت میں گرفتار کرنے والے ۔ درسن ۔ دیدار۔ بارے ۔ وارے ۔ قربان (1) رہاؤ۔ داتا۔ سخی۔ سخاوت کرنے والا۔ دین ۔ غریب ۔ کمزور۔ بھیکھاری ۔ بھیک۔ مانگنے والے ۔ اپکارے ۔ دوسروں کے کام آنے والے ۔ ٹھاکر۔ آقا۔ اگم۔ انسانی رسائی سے بلند۔ ۔ اپارے جسکا کوئی ۔ کنار نہ ہو ۔ اتنا وسیع (2) سیو۔ خدمت ۔ رییبھاوؤ۔ خوشنودی حاصل کروں۔ درسارے ۔ دیدار ۔ بدھ ۔ طریقہ ۔ مت ۔ اندازہ (3) ڈیٹح ۔ بے حیا۔ سنت رینارے ۔ پاکدامن روحانی رہبروں کی دہول ۔ گر ۔ مرشد۔ کرپا۔ مہربانی۔ ہاتھ دئے ۔ ہاتھ دیکر۔ مراد کرکے ۔ نستارے ۔ کامیابی عنایت کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے کر شمئی دلربا پیارے خدا تیرے دیدار پر قربان ہوں (1) رہاؤ۔ میں تیرے کیا کیا اوصاف دلمیں بساوں اے سخی داتا میں بے اوصاف ہوں ۔ تیرا قیمتا خرید ہو غلام تیرے ساتھ کیادہوکا یا چلااکی یا فریب کر سکتا ہے ۔ یہ روح اور جسم سب تیرا ہے (1) اے خدا تو سخاوت کرنے والا سخی ہے اور میں ایک غریب بھکاری تم سدا سدا دوسروں کے کام آنے والا مہربان میرے آقا تو انسای رسائی سےب لند ترین بھاری وسعتوں والی ہستی ہے ۔ ایسا کوئی کام نہیں جو میں کر سکوں (2) میں کیا ویسی خدمت کروں اور کیا کہہ کر خوشنودی حاصل کروں اور کونسا طریقہ اختیار کرو ں جس سے ملے دیدار ۔ اندازہ نہیں ہو سکتا نہ نہ آخرت کا پتہ چل سکتا ہے میرے دل میں تیر ے پاوں کی پیاس ہے (3) میں بے غیرت ہوکر چرات مانگتا ہوں میرے (منہ ) (پر) پیشانی پر دہول پائے پاکدامن روحانی رہبروں کی دہول لگتی رہے ۔ خادم نانک پر مرشد نے کرم و عنایت فرمائی اور خدا نے اپنی امداد سے کامیابی عنایت کی ۔

سوُہیِ مہلا ੫ گھرُ ੩
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
سیۄا تھوریِ ماگنُ بہُتا ॥
مہلُ ن پاۄےَکہتوپہُتا॥੧॥
جو پ٘رِءمانےتِنکیِریِسا॥
کوُڑے موُرکھ کیِ ہاٹھیِسا ॥੧॥ رہاءُ ॥
بھیکھ دِکھاۄےَسچُنکماۄےَ॥
کہتو مہلیِ نِکٹِ ن آۄےَ॥੨॥
اتیِتُ سداۓمائِیاکاماتا॥
منِ نہیِ پ٘ریِتِکہےَمُکھِراتا॥੩॥
کہُ نانک پ٘ربھبِنءُسُنیِجےَ॥
کُچلُ کٹھورُ کامیِ مُکتُ کیِجےَ ॥੪॥
درسن دیکھے کیِ ۄڈِیائیِ॥
تُم٘ہ٘ہسُکھداتےپُرکھسُبھائیِ॥੧॥ رہاءُ دوُجا ॥੧॥੭॥
لفظی معنی:
محل ۔ ٹھکانہ ۔ پہوتا۔ خدا رسیدہ ۔ (1) ر یہ مانے ۔ پیارے کے منظور نظر۔ ریسا۔ برابری ۔ کوڑے ۔ جھوٹے ۔ ہاٹھیسا۔ ضد (1) رہاؤ۔ بھیکھ ۔ بناوٹ۔ سچ ۔ حقیقت۔ کہو ۔ کہتا ہے۔ نکٹ ۔ نزدیک(2) اتیت ۔ تیاگی ۔ طارق۔ مائیا کا ماتا۔ دولت میں محؤو۔ پریت۔ پیار۔ راتا۔ محو ومجذوب (3) بنو سنیجے ۔ عرض سنیئے ۔ کچل۔ ناپاک ۔ گندہ ۔ گٹھور۔ بیرحم۔ کامی ۔ شہوت کا دلدادہ۔ مکت۔ نجات۔ آزادی (4) وڈیائی ۔ عظمت۔ بلندی ۔ سکھداتے ۔ آرام وآسائش دینے والے ۔(1) رہاؤ دوجا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
چھوٹے او ر جہال کی ہے ضد کرتا ہے برابری جو منظور نظر خدا کے ہیں۔ رہاؤ۔ (1) خدمت کم ہے عوضانہ زیادہ چاہتا ہے ۔ منزل پائی نہیں کہتا ہے پہنچ گیا ہوں (1) دکھاوا کرتا ہے ۔ حقیقت پر عمل ہیں ۔ کہتا ہے ٹھکانہ یا منزل پالی ہے جب کہ منزل کے نزدیک بھی نہیں پہنچا (2 ) طارق کہلاتا ہے ۔ مگر دوتل کے لالچ میں محو ومجذوب ہے ۔ دلمیں نہیں پیار (کہلاتا) کہتا ہے پیار میں محو ومجذوب ہوں (3) ناپاک بد اخلاق بیرحم اور شہوت کا دلدادہ ہے ۔ اےنانک بتادے ۔ اور عرض گذار خدا سے اسے نجات دلا ان برائیوں سے (4) اے خدا آرام و آسائش دینے کی ہے تجھے توفیق اور رحمان الرحیم ہے تو پیار سے بھرا ہو یہ عظمت کر عنایت کر دیدار تیرا ہو حاصل (1) رہاؤ دوجا ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
بُرے کام کءُ اوُٹھِ کھلوئِیا ॥
نام کیِ بیلا پےَ پےَ سوئِیا ॥੧॥
ائُسرُ اپنا بوُجھےَ ن اِیانا ॥
مائِیا موہ رنّگِ لپٹانا ॥੧॥ رہاءُ ॥
لوبھ لہرِ کءُ بِگسِ پھوُلِ بیَٹھا ॥
سادھ جنا کا درسُ ن ڈیِٹھا ॥੨॥
کبہوُ ن سمجھےَ اگِیانُ گۄارا॥
بہُرِ بہُرِ لپٹِئو جنّجارا ॥੧॥ رہاءُ ॥
بِکھےَ ناد کرن سُنھِ بھیِنا ॥
ہرِ جسُ سُنت آلسُ منِ کیِنا ॥੩॥
د٘رِسٹِناہیِرےپیکھتانّدھے॥
چھوڈِ جاہِ جھوُٹھے سبھِ دھنّدھے ॥੧॥ رہاءُ ॥
کہُ نانک پ٘ربھبکھسکریِجےَ॥
کرِ کِرپا موہِ سادھسنّگُ دیِجےَ ॥੪॥
تءُ کِچھُ پائیِئےَ جءُ ہوئیِئےَ رینا ॥
جِسہِ بُجھاۓتِسُنامُلیَنا॥੧॥ رہاءُ ॥੨॥੮॥
لفظی معنی:
بیلا۔ وقت۔ پے پے سوئیا۔ غفلت کرتا ہے ۔ اؤسر۔ موقعہ ایانا۔ نادان۔ پسٹانا۔ محو ومجذوب (1) رہاؤ۔ وھے ناد۔ بد کاریوں کی آوازیں ۔ گانے ۔ کرن ۔ کانوں سے ۔ بھینا ۔ خوش ہوتا ہے ۔ ہر جس۔ الہٰی صفت صلاح۔ الس۔ سستی (3) لوبھ لہر۔ لالچ کی امنگ ۔ خواہش ۔ وگس۔ خوش ۔ سادھ ۔ جس نے اپنی طر زندگی کو روحا و اخلاقی طور پر درست اور راہ راست پر لگالای۔ درس۔ دیدار (2) اگیان گوارا۔ بے علم جاہل۔ بہور بہور۔ دوبارہ دوبارہ۔ جنجار۔ جنجال ۔ پھندہ (1) رہاؤ۔ وکھے ناد۔ شہوت بھری آوازیں۔ سادھ سنگ۔ نیک انسانوں کی صحبت (4) رینا۔ دہول۔ جسے بجھائے ۔ جسے سمجھائے ۔ نام لینا۔ سچ و حقیقت اپنانا (1) رہاو۔
ترجمہ معہ تشریح:
انسان برائیوں کے لئے تیار رہتا ہے سچ حق و حقیقت الہٰی نام میں غفلت کرتا ہے (1) ناوان موقعہ شناشی نہیں کرتا دنیاوی دولت کی محبت میں مصروف رہتا ہے (1) رہاؤ۔ لالچ میں پھولا نہیں سماتا خوش ہوتا ہے ۔ کبھی نیک پار ساوں اور روحآنی واخلاقی پاکدامنوں کا دیدار نہیں کرتا (2) جاہل انسان کبھی سمجھتا بار بار دنیاوی الجھنو اور مخمسوں میں پھنستا ہے (1) رہاؤ۔ گندے بدکاریوں شہوت بھرے گانے کانوں سے سنکر خوش ہوتا ہے ۔ مگر الہٰی کلام سننے میں غفلت کرتا ہے (3) اے عقل کے اندھے انسان کیا تو اپنی آنکھوں سے نہیںد یکھ رہا کہ سارے جھوٹے کام چھوڑ کر چلے جاتا ہے (1) رہاؤ۔ اے نانک بتادے کہ اے خدا کرم وعنیات فرما اپنی رکم وعنایت سے صحبت پاکدامناں و خدا رسیدہ گان عنایت کر (4) عاجزی انکساری اور دہول بننے سے ہی کچھ حآصل نہیں ہوتا جسے سمجھتا ہے وہ الہٰی نام سچ حق وحقیقت یاد رکھتا ہے ۔ دل میں بساتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گھر مہِ ٹھاکُرُ ندرِ ن آۄےَ॥
گل مہِ پاہنھُ لےَ لٹکاۄےَ॥੧॥
بھرمے بھوُلا ساکتُ پھِرتا ॥
نیِرُ بِرولےَ کھپِ کھپِ مرتا ॥੧॥ رہاءُ ॥
جِسُ پاہنھ کءُ ٹھاکُرُ کہتا ॥
اوہُ پاہنھُ لےَ اُس کءُ ڈُبتا ॥੨॥
گُنہگار لوُنھ ہرامیِ ॥
پاہنھ ناۄنپارگِرامیِ॥੩॥
گُر مِلِ نانک ٹھاکُرُ جاتا ॥
جلِ تھلِ مہیِئلِ پوُرن بِدھاتا ॥੪॥੩॥੯॥
لفظی معنی:
گھر میہہ ٹھاکر ۔ خدادلمیں بستا ہے ۔ پاہن۔ پتھر (1) بھرمے ۔ وہم وگمان میں۔ ساکت ۔ دولت کا دلدادہ ۔ مادہ پرست۔ نیر ۔ پانی ۔ ہروے ۔ رڑکتا یا بلوتا ہے ۔ گھپ گھپ مرتا ۔ ذلیل وخوار ہوتا ہے ۔ فضول کام کرتا ہے (1) رہاؤ۔ پاہن ناد۔ پتھر ی کشتی ۔ یار گرامی ۔ کنارے نہیں لگانی (3) ٹھاکر جانا ۔ مالک کو پہچاتا ۔ جل تھل مہئل۔ زمین ۔ صمان اور پانی ۔ پورن بدھاتا ۔ مکمل طور پر تقدیر ساز بستا ہے ۔

ترجمہ معہ تشریح:
خدا سے منکر انسان وہم وگمان میں بھٹکتا پھرتا ہے ۔ پانی بلوتا ہے مراد فضول بیکار کاموں میں زلیل وخوار ہوتا ہے ۔ر اہو۔ ڈخا دل میں بستا ہےنظر نہیں آتا پتھری گلے لٹکاتا ہے (1) جس پتھر کو آقا یا خدا کہتا ہے ۔ وہی پتھر اسے لیکر ڈوب جاتا ہے (2) اے گناہگار نمک حرام پتھر کی کشتی پار نہیں لگاتی ۔ (3) مرشد کے ملاپ سے اے نانک خدا کی پہچان کر لی سمجھ لیا وہ کار ساز کرتار زمین آسمان اور سمندر میں ہر جا بستا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
لالنُ راۄِیاکۄنگتیِریِ॥
سکھیِ بتاۄہُمُجھہِمتیِریِ॥੧॥
سوُہب سوُہب سوُہۄیِ॥
اپنے پ٘ریِتمکےَرنّگِ رتیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
پاۄملوۄءُسنّگِنیَنبھتیِریِ॥
جہا پٹھاۄءُجاںءُتتیِریِ॥੨॥
جپ تپ سنّجم دیءُ جتیِ ریِ ॥
اِک نِمکھ مِلاۄہُموہِپ٘رانپتیِریِ॥੩॥
مانھُ تانھُ اہنّبُدھِ ہتیِ ریِ ॥
سا نانک سوہاگۄتیِریِ॥੪॥੪॥੧੦॥
لفظی معنی:
لالن۔ لعل۔ خدا۔ راویا۔ ملاپ کا لطف۔ گتی ۔ کس طرح۔ مجھہہ متی ری ۔ مجھے وہ سمجھ سمجھاؤ (1) صوحب صوحب صوحبی ۔ اے سرخ سرخ سرخی ۔ پرتیم ۔ پیارے ۔ رنگ رتی ۔ ۔ پیار میں محو (1) رہاؤ۔ پاؤ۔ پاؤں ملووؤ۔ ملوں۔ نین ۔ آنکھوں ۔ بھتیری ۔ پتلے سے ۔ پٹھاؤ۔ بھجہو۔ تتی ری ۔ فورا (1) جپ ۔ تپ سنجم۔ ریاض ۔ تپسیا۔ اور ضبط۔ پران پتی ۔ زندگی کے مالک (3) مان ۔عزت ۔ وقار۔ تان۔ طقت۔ قوت ۔ اہبند ۔ غرور۔ تکبر۔ ہتی ۔ مٹاؤ۔ سہاگ ولی ۔ خدا پرست ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے ساتھی تیرا چہرا س رخروئی سے دمک رہا ہے تو اپنے پیارے کے پریم میں محو ومجذوب ہے (1) رہاؤ۔ اے ساتھی کس طریقےس ے الہٰی ملاپ حاصل کیا ہے مجھے بھی وہ عقل و شعور اور طریقہ بتاؤ (1) اے ساتھی میں تیرے پاؤں ادب و اداب کے لئے تیری محبت میں انکھوں کی پتیلوں سے تیرے پاؤں کی مالش کرونگا جہاں بھیجو گے ۔ خوشی خوشی جاؤں گا(2) اے ساتھی اگر تو آنکھ جھپکنے کے تھوڑے سے وقفے کے لئے ھی ملادے میری زندگی کے مالک تو میں اسکے عوض ساری عبادت وریاضت و پرہیز گاری تجھ پر قربان کردو (3) اے نانک۔ جو انسان وقار ۔ قوت اور تکبر چھوڑ دیتا ہے وہ خدا پرست خادم خدا اور اسکا محبوب ہو جاتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
توُنّ جیِۄنُتوُنّپ٘رانادھارا॥
تُجھ ہیِ پیکھِ پیکھِ منُ سادھارا ॥੧॥
توُنّ ساجنُ توُنّ پ٘ریِتمُمیرا॥
چِتہِ ن بِسرہِ کاہوُ بیرا ॥੧॥ رہاءُ ॥
بےَ کھریِدُ ہءُ داسرو تیرا ॥
توُنّ بھارو ٹھاکُرُ گُنھیِ گہیرا ॥੨॥
کوٹِ داس جا کےَ دربارے ॥
نِمکھ نِمکھ ۄسےَتِن٘ہ٘ہنالے॥੩॥
ہءُ کِچھُ ناہیِ سبھُ کِچھُ تیرا ॥
اوتِ پوتِ نانک سنّگِ بسیرا ॥੪॥੫॥੧੧॥
لفظی معنی:
پران۔ سانس۔ زندگی ۔ ادھارا۔ آسرا۔ سادھار۔ آسرا ۔ لیکن (1) چتیہہ۔ دل سے ۔ بسریہہ۔ بھولے ۔ کا ہو بیرا۔ کبھی بھی (1) رہاؤ۔ بیعہ خرید ۔ قیمتا خریدا ہوا ۔ داسرو ۔ غلام ۔ گنی گہرا ۔ بھاری اوصاف (2) کوٹ واس ۔ کروڑوں غلام ۔ نمکھ نمکھ ۔ تھوڑے تھوڑے وقفے کے لئے (3 ) اوت پوت۔ تانے پیٹے جیسا ملاپ ۔ سنگ بسیر ۔ ساتھ بسنا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تو ہی میرا پیار دوست ہے تو کبھی میرے دل سے نہ بھولے (1) تو میرا بھاری سنجیدہ اوصاف والا مال ہے میں قیمتاً خرید ہو اغلام ہوں (2) جس کے دربار میں کروڑوں غلام اور خریدار ہیں۔ وہ ہر وقت انکے ساتھ بستا ہے (3) اے خدا میں نا چیز ہوں ہر چیز تیری ہی عنایت کردہ ہے تانے پیٹے کی طرف نانک کے ساتھ تو بستا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
سوُکھ مہل جا کے اوُچ دُیارے ॥
تا مہِ ۄاسہِبھگتپِیارے॥੧॥
سہج کتھا پ٘ربھکیِاتِمیِٹھیِ॥
ۄِرلےَکاہوُنیت٘رہُڈیِٹھیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
تہ گیِت ناد اکھارے سنّگا ॥
اوُہا سنّت کرہِ ہرِ رنّگا ॥੨॥
تہ مرنھُ ن جیِۄنھُسوگُنہرکھا ॥
ساچ نام کیِ انّم٘رِتۄرکھا॥੩॥
گُہج کتھا اِہ گُر تے جانھیِ ॥
نانکُ بولےَ ہرِ ہرِ بانھیِ ॥੪॥੬॥੧੨॥
لفظی معنی:
سوکھ محل ۔ پر سکون ۔ ٹھکانے ۔ اوچ دربارے ۔ بلنددربار ۔ بھگت۔ عاشقان الہٰی۔ سہج کتھا۔ روحانی کہانی ۔ میٹھی ۔ پیاری ۔ ورے ۔ کسی نے ہی ۔ کاہو۔ کبھی ۔ ڈیٹھی ۔ دیکھی ۔ (1) رہاؤ۔ گیت ۔ گانے ۔ اکھارے ۔ میلے ۔ سنت ۔ روحانی رہبر۔ ہر رنگا۔ الہٰی پیار (2) سوگ نہ ہرکھا ۔ نہ غمی نہ خوشی ۔ ساچ نام۔ صدیوی سچ حق وحقیقت۔ برکھا۔ بارش (3) گہج کتھا۔ پوشیدہ کہانیاں۔ ہر ہر بانی۔ خدا خدا کا کلام ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کی روحانی کہانیاں ہیں نہایت پر لطف مگر کسی نے ہی اسے اپنی آنکھوں سے نظارہ کیا ہے (1) رہاؤ۔ اس اونچی عدالت کے مالک کدا کے محلات میں جہاں روحانیس کون ہے میں وہاں عاشقان الہٰی کی جائے مسکین ہے (1) وہاں روحانی سنگیت اور سنگیت کے اکھاڑے چلتے ہیں اور وہاں روحانی رہبر الہٰی محبت اور پیار کا لطف لیتے ہیں (2) نہ تناسخ ہے وہاں اور غمگینی اور خوشی کا کوئی تاثر۔ وہاں آب حیات اور الہٰینام سچ وحقیقت پر منحصر بارش ہوتی ہے (3) یہ پوشیدہ بیان اور کہانی مرشد نے سمجھائی ہے نانک یہ الہٰی کلام کہتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
جا کےَ درسِ پاپ کوٹِ اُتارے ॥
بھیٹت سنّگِ اِہُ بھۄجلُتارے॥੧॥
اوءِ ساجن اوءِ میِت پِیارے ॥
جو ہم کءُ ہرِ نامُ چِتارے ॥੧॥ رہاءُ ॥
جا کا سبدُ سُنت سُکھ سارے ॥
جا کیِ ٹہل جمدوُت بِدارے ॥੨॥
جا کیِ دھیِرک اِسُ منہِ سدھارے ॥
جا کےَ سِمرنھِ مُکھ اُجلارے ॥੩॥
پ٘ربھکےسیۄکپ٘ربھِآپِسۄارے ॥
سرنھِ نانک تِن٘ہ٘ہسدبلِہارے॥੪॥੭॥੧੩॥
لفظی معنی:
درس۔ دیدار سے ۔ کوٹ پاپ۔ کروڑوں گناہ۔ بھیٹت۔ ملاپ ۔ بھوجل۔ دنیاوی زندگی میں کامیابی ۔ کو ایک سمندر سے مشابہہ کیا ہے ۔ ساجن۔ میت۔ دوست۔ چنارے ۔ یاد کرائے (1) رہاؤ۔ سبد ۔کلام۔ ٹہل۔ خدمت ۔ بدارے ۔ ختم کرتی ہے (2) دھیرک ۔ دھیرج ۔ بھرؤصا۔ سدرھارے ۔ آصرا۔ اجلارے ۔ سرخرو ۔ روشن چہرہ (3) پربھ کے سیوک۔ الہٰی خدمتگار
ترجمہ معہ تشریح:
وہی ہیں میرے پیارے دوست جو یاد خدا کی دلاتے ہیں (1) رہاو۔ جن کے دیدار سے کروروں گناہ عافو ہوجاتے ہیں اور جن کے ملاپ اور ساتھ سے اس خوفناک سمندر کی (سے) سی زندگی کو کامیابی سے عبور حاصل ہوجاتا ہے مراد زندگی کامیاب ہو جاتی ہے (1) جن کا کلام سننے سے ہر قسم کا آرام و آسائش حاصل ہو تا ہے۔ جس کی خدمت سے فرشتہ موت بھی ختم ہوجاتا ہے (2) جن پر ایمان و یقین لانے سے د ل کو تسین ملتی ہے ۔ جن کی یاد سےچہرہ روشن ہوتا ہے سرخروئی حاصل ہوتی ہے (3) خدا اپنے خدمتگاروں کی زندگی اور چلن خوددرست کرتا ے ۔ نانک ان کی پشت پناہی پر قربان ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
رہنھُ ن پاۄہِسُرِنردیۄا॥
اوُٹھِ سِدھارے کرِ مُنِ جن سیۄا॥੧॥
جیِۄتپیکھےجِن٘ہ٘ہیِہرِہرِدھِیائِیا॥
سادھسنّگِ تِن٘ہ٘ہیِدرسنُپائِیا॥੧॥ رہاءُ ॥
بادِساہ ساہ ۄاپاریِمرنا॥
جو دیِسےَ سو کالہِ کھرنا ॥੨॥
کوُڑےَ موہِ لپٹِ لپٹانا ॥
چھوڈِ چلِیا تا پھِرِ پچھُتانا ॥੩॥
ک٘رِپانِدھاننانککءُکرہُ داتِ ॥
نامُ تیرا جپیِ دِنُ راتِ ॥੪॥੮॥੧੪॥
لفظی معنی:
رہن نہ پاویہہ۔ زندہ نہیں رہ سکتے ۔ سر نہ دیو۔ دیوتے اور بلند اخلاق انسان (1) ۔ جیوت پیکھے ۔ زندہ وہی دیکھے ۔ ہرہر دھیائیا۔ جنہوں نے دھیان لگائیا یاد خدا مں۔ سادھ سنگ ۔ صحبت و قربت پاکدامناں (1) کالیہہ کھرنا۔ موت نےلیجانا ہے (2) کوڑے ۔ جھوٹے ۔ لپٹ لپٹانا۔ ملوث ہونا (3) کر پاندھان۔ مہر بانی کے خزانے ۔ رحمان الرحیم۔
ترجمہ معہ تشریح:
ان کو ہی صدیوی زندگی جیتے اور روحانی واخلاقی زندگی گذارتے دیکھا جنہوں نے خدا میں اپنا دھیان لگائیا۔ انہوں نے ہی صحبت و قربت پاکدامناں میں دیدار حاصل کیا (1) رہاؤ۔ خواہ ہے فرشتہ سیرت انسان یا فرشتہ ، پیر ، پیغمبر خدمت رکتے چلے گئے کوئی صدیوی نہیں رہا (1) خواہ بادشاہ ہے یاشاہوکار یاد سب نے آخر مرنا ہے ۔ جو زیر نظر ہے آخر موت نے اسکو لیجانا ہے (2) جھوٹی محبت میں جو ہے ملوچ آخر چھوڈ کے جب جاتا ہے تو پھر پچھتا تا ہے (3) اے رحمان الرحیم نانک کو دیجیئے یہ خیرات یاد کروں تجھے دن رات۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گھٹ گھٹ انّترِ تُمہِ بسارے ॥
سگل سمگ٘ریِسوُتِتُمارے॥੧॥
توُنّ پ٘ریِتمتوُنّپ٘رانادھارے॥
تُم ہیِ پیکھِ پیکھِ منُ بِگسارے ॥੧॥ رہاءُ ॥
انِک جونِ بھ٘رمِبھ٘رمِبھ٘رمِہارے॥
اوٹ گہیِ اب سادھ سنّگارے ॥੨॥
اگم اگوچرُ الکھ اپارے ॥
نانکُ سِمرےَ دِنُ ریَنارے ॥੩॥੯॥੧੫॥
لفظی معنی:
گھٹ گھٹ ۔ ہر دل میں۔ بسارے ۔ بستا ہے ۔ سگل۔ ساری ۔ سمگری ۔ سامان۔ سوت۔ زیر نظام (1) پران ادھارے ۔ زندگی کا آسرا ۔ وگسارے ۔ خوش (1) رہاو انک جون۔ بہت سی زندگیاں ۔ بھرم بھرم ہارے ۔ بھٹک بھٹک کر شکست خوردہ ہوجاتی ہے ۔ اوٹ گہی ۔ آسرا لیا ہے ۔ سادھ سنگارے ۔ صحبت و قربت پاکدامن (2) اگم اگو چرالکھ اپارے ۔ انسانی رسائی بلند جو بیان سے بعید ۔ جس کا حساب یا سمجھنا ناممکن جس کی وسعت اتنی کہ کنارہ نہیں۔ مراد خدا۔ دن رینارے ۔ روز و شب ۔ دن رات۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا ہر دل میں تو بستا ہے ۔ ہر چیز تیرے زیر نظام ہے (1) اے میرے پیارے خدا تو ہی میرے زندگی کا سہارا ہے او ر تیرے دیدار سے خوش میسر ہوتی ہے (1) رہاؤ۔ بیشمار زندگیاں بھٹک رہی ہیں اور اب صحبت و قربت پاکدامن آسرا لیاہے (2) انسانی رسای سے اوپر نا قابل بیان سمجھ سے باہر اعداد و شمار سے باہر خدا کو میں نانک رو و شب دھیان لگاتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
کۄنکاجمائِیاۄڈِیائیِ॥
جا کءُ بِنست بار ن کائیِ ॥੧॥
اِہُ سُپنا سوۄتنہیِجانےَ॥
اچیت بِۄستھامہِلپٹانےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
مہا موہِ موہِئو گاۄارا॥
پیکھت پیکھت اوُٹھِ سِدھارا ॥੨॥
اوُچ تے اوُچ تا کا دربارا ॥
کئیِ جنّت بِناہِ اُپارا ॥੩॥
دوُسر ہویا ن کو ہوئیِ ॥
جپِ نانک پ٘ربھایکوسوئیِ॥੪॥੧੦॥੧੬॥
لفظی معنی:
کون کاج ۔ کیس کام۔ مائیا ودیائی ۔ عظمت مادیات۔ ونست ۔ مٹے ۔ بار ۔ دیر (1) سپنا ۔ خواب۔ سوت ۔ خوابیدہ ۔ غفلت میں۔ اچیت ۔ غفلت ۔ نادانی ۔ بوستھا ۔ حالت۔ لپٹانا۔ ملوث (1) رہاؤ۔ گاوار۔ جاہل۔ پیکھت پیکھت ۔ دیکھتے دیکھتے ۔ اوٹھ سد ھار۔ کوچ کر گیا (2) بنا ہے ۔ مٹاتا ہے ۔ اپار۔ پیدا کرتا ہے (3) دوسر ۔ دوسرا ۔ ایکو۔ واحد ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ عالم اور زندگی ایک خواب ہے مگر غفلت کی نیند میں سویا ہوا انسان سمجھتا نہیں۔ غفلت میں ملوث ہے (1) رہاؤ۔ دنیاوی دولت کی عظمت اور مدح سرائی کسی کام نہیں جسے مٹتے اور ختم ہونے میں دیر نہیں لگتی (1) جاہل انسان اس کی بھاری محبت میں گرفتار ہے گر دیکھتے دیکھتے اس عالم سے کوچ کر جاتا ہے (2) اس کی عدالت بلند سے بلند ترین ہے بہت سے جانداروں کومٹاتا اور پیدا کرتا ہے (3) اے نانک یاد کر خدا واحد کو دوسرا نہیں کوئی علاوہ اسکے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
سِمرِ سِمرِ تا کءُ ہءُ جیِۄا॥
چرنھ کمل تیرے دھوءِ دھوءِ پیِۄا॥੧॥
سو ہرِ میرا انّترجامیِ ॥
بھگت جنا کےَ سنّگِ سُیامیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
سُنھِ سُنھِ انّم٘رِتنامُدھِیاۄا॥
آٹھ پہر تیرے گُنھ گاۄا॥੨॥
پیکھِ پیکھِ لیِلا منِ آننّدا ॥
گُنھ اپار پ٘ربھپرماننّدا॥੩॥
جا کےَ سِمرنِ کچھُ بھءُ ن بِیاپےَ ॥
سدا سدا نانک ہرِ جاپےَ ॥੪॥੧੧॥੧੭॥
لفظی معنی:
تاکؤ۔ اسے ۔ چرن کمل۔ کمل کے پھول کی مانند پاک (1) انتر جامی ۔ دلی راز جاننے والا ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ سوآمی ۔ آقا (1) رہاو۔ انمرت نام۔ آب حیات نام جس سے زندگی میں روحانیت پیدا ہوتی ہے ۔ دھیاوا۔ دھیان دوں (2) لیلا۔ تماشے ۔ آنند۔ سکون ۔ پر مانند ۔ بھاری سکون والا (3) سمرن۔ یادوریاض سے ۔ بھؤ۔ خوف۔ نہ دیاپے ۔ نہیں آتا ۔سدا سدا۔ ہمیشہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
میرا خدا دلی راز جاننے والا ہے وہ اپنے پریمیوں کے ساتھ بستا ہے () رہاؤ۔ اس کی یاد سے زندگی ملتی ہے ۔ میری خواہش ہے کہ تیرےپاؤں دہوکھے پیوں (1) اے خدا تیرا روحانی زندگی عنایت کرنے والا آب حیات نام میں توجہ دوں۔ دھیان لگاوں اور ہر وقت حمدوثناہ کرؤں (2) تیرے چلن وکار دیکھ کر دلمیں سکون پیدا ہوتا ہے لطف ملتا ہے ۔ اے انتہائی پر سکون خدا لاتعداد اوصاف والا ہے (3) اے نانک۔ ہمیشہ اس خدا کی یادوریاض کر جس کی ریاض سے خوف اپناتاثر نہیں ڈال سکتا۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گُر کےَ بچنِ رِدےَ دھِیانُ دھاریِ ॥
رسنا جاپُ جپءُ بنۄاریِ॥੧॥
سپھل موُرتِ درسن بلِہاریِ ॥
چرنھ کمل من پ٘رانھادھاریِ॥੧॥ رہاءُ ॥
سادھسنّگِ جنم مرنھ نِۄاریِ॥
انّم٘رِتکتھاسُنھِکرنادھاریِ॥੨॥
کام ک٘رودھلوبھموہتجاریِ॥
د٘رِڑُنامدانُاِسنانُسُچاریِ॥੩॥
کہُ نانک اِہُ تتُ بیِچاریِ ॥
رام نام جپِ پارِ اُتاریِ ॥੪॥੧੨॥੧੮॥
لفظی معنی:
گر کے بچن کلام مرشد۔ ردے ۔ ذہن۔ دھیان ۔ توجہ ۔ رسنا ۔زبان۔ بنواری ۔ جنگلات کا ملاک خدا (1) سپھل مورت۔ کامیاب انسان یا ہستی ۔ درسن۔ دیدار ۔ بلہاری ۔ قربان۔ پران آدھاری ۔ زندگی کا آسرا (1) رہاؤ۔ نواری ۔ مٹانا۔ کرن ۔ کانوں ۔ ادھاری ۔ آسرا (2) تجاری ۔ ترک ۔ چھوڑنا۔ درڑ۔ پختہ ۔ پکا ۔ سچاری ۔ خوش اخلاق۔ تت۔ اصلیت۔ حقیقت ۔ پار اتاری
ترجمہ معہ تشریح:
مرشد کی واعظ و نصیحت سے دل میں خدا میں دھیان اور توجہ دو ۔ اور زبان سے ریاض کرؤ (1) مرشد کو انسانی زندگی میں کامیاب بنانے کی توفیق ہے ۔ قربان ہوں اسکے دیدار پر اسکے پاک پاؤں دل اور زندگی کے لئے آسرا ہیں (1) رہاؤ۔ پاکدامن نیک انسان کی صحبت تناسخ مٹاتی ہے اور آب حیات کہانی جس سے زندگی روحآنی اوراخلاقی نیک ہوجاتی ہے اور کانوں سے سن کر زندگی کا آسرا بن جاتی ہے (2) شہوت ، غصہ لالچ اور دنیاوی محبت ترک ہوجاتی ہے ۔ دلمیں الہٰی نام خیرات کرنا اور پاک رہنا اور حسن اخلاق سے زندگی راہ راست پر آجاتی ہے (3) اے نانک بتادے ۔ کہ یہ حقیقت و اصلیت ہے الہٰی نام کی ریاض سے کامیابی حاصل ہوتی ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
لوبھِ موہِ مگن اپرادھیِ ॥
کرنھہار کیِ سیۄنسادھیِ॥੧॥
پتِت پاۄنپ٘ربھ نام تُمارے ॥
راکھِ لیہُ موہِ نِرگُنیِیارے ॥੧॥ رہاءُ ॥
توُنّ داتا پ٘ربھانّترجامیِ॥
کاچیِ دیہ مانُکھ ابھِمانیِ ॥੨॥
سُیاد باد ایِرکھ مد مائِیا ॥
اِن سنّگِ لاگِ رتن جنمُ گۄائِیا॥੩॥
دُکھ بھنّجن جگجیِۄنہرِرائِیا॥
سگل تِیاگِ نانکُ سرنھائِیا ॥੪॥੧੩॥੧੯॥
لفظی معنی:
مگن ۔ محو۔ مست۔اپرادھی گناہگار۔ مجرم۔ کرنہار۔ کار ساز۔ کرتار۔ سیو نہ سادھی ۔ خدمت نہ کی (1) پتت پاون۔ ناپاک کو پاک بنانے والا۔ نام۔ سچ ۔ حق و حقیقت۔ راکھ لیہو۔ بچاؤ۔ نرگنہارے ۔ بے اوصاف (1) رہاؤ۔ توداتا انتر جامی ۔ اے خدا تو راز دل جاننے والا سخی ہے ۔ کاچی دیہہ۔ کچا جسم۔ مراد جلد ختم ہو جانیوالا ۔ سنکھ ابھیمانی ۔ مغرور انسان (2) سوآد۔ لطف۔ مزہ ۔ باد۔ جھگڑا۔ ہرکھ ۔ حسد۔ جلن ۔ مدمائیا۔ دؤلت یا سرمایہ کا غرور ۔ سنگ ۔ ساتھ۔ رتن جنم۔ قیمتی زندگی (3) دکھ بھنجن۔ عذآب مٹانے والا۔ جگجیون ۔ زندگئے عالم۔ تیاگ۔ ترک ۔ سرنایا ۔ پناہ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تیرا نام سچ حق وحقیقت سے زندگی پاکیزہ اور پاک بنانے والا ہے ۔ میں بے اوصاف ہون مجھے بچا لو (1) رہاؤ۔ گناہگار انسان لالچ دنیاوی دولت کی محبت میں محو ہے ۔ کارساز کرتار کی خدمت نہیں کرتا (1) اے خدا تو دل کے پوشیدہ راز جاننے والا ہے ۔ اے انسان اس فانی خام جسم پر ناز کرتا ہے مغرور ہے (2) لطف مزے جھگڑے حسد اور دنیاوی دولت کی مستی میں مصروف ہے ان کے ساتھ سےاپنی قیمتی زندگی ضائع کر رہا ہے (3) خدا عذاب مٹانے والا حکمران و شہنشاہ ہے ۔ سب کچھ چھوڑ کر ترک کرکے تیری پشت پناہی حاصل کی ہے نانک نے اے خدا ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
پیکھت چاکھت کہیِئت انّدھا سُنیِئت سُنیِئےَ ناہیِ ॥
نِکٹِ ۄستُکءُجانھےَدوُرےپاپیِپاپکماہیِ॥੧॥
سو کِچھُ کرِ جِتُ چھُٹہِ پرانیِ ॥
ہرِ ہرِ نامُ جپِ انّم٘رِتبانیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
گھور مہل سدا رنّگِ راتا ॥
سنّگِ تُم٘ہ٘ہارےَکچھوُ نا جاتا ॥੨॥
رکھہِ پوچارِ ماٹیِ کا بھاںڈا ॥
اتِ کُچیِل مِلےَ جم ڈاںڈا ॥੩॥
کام ک٘رودھِلوبھِموہِبادھا॥
مہا گرت مہِ نِگھرت جاتا ॥੪॥
نانک کیِ ارداسِ سُنھیِجےَ ॥
ڈوُبت پاہن پ٘ربھمیرےلیِجےَ॥੫॥੧੪॥੨੦॥
لفظی معنی:
سچ۔ حق و حقیقت یعنی الہٰی نام کے اپنائے بغیر انسان سب کچھ دیکھتے ہوئے ۔ دیدہ دانشتہ آنکھوں سے اندھا اور کانوں سے بہرہ ہے ۔ پیکھت۔ دیکھتے ہوئے ۔ چاکھت۔ مزہ چکھتے ہوئے ۔ کہیت ۔ کہتے ہیں۔ اندھا ۔ سنیت۔ سننے کے باوجود۔ سنیئے ناہی سنتا نہیں۔ نکٹ۔ نزدیک ۔ پاپی ۔ گناہگار۔ پاپ کماہی ۔ گناہ کرتا ہے ۔ (1) چھٹیہہ پرانی ۔ اے انسان نجات حاصل ہو ۔ انمرت بانی ۔ آب حیات کلام ۔ وہ کلام جس سے زندگی روحانی ہو جاتی ہے (1) رہاؤ۔ گور۔گھوے ۔ محل۔ محلات۔ رنگ ۔ پریم ۔ رتا۔ محو۔ رکھیہہ بوچار۔ صاف کرکے (2) کچل۔ گندہ ۔ ناپاک۔ ڈانڈا۔ سزا۔ (3) کام ۔ کرودھ ۔ لوبھ ۔ موہ ۔ شہوت۔ غصہ۔ لالچ و نیاوی محبت ۔ بادھا۔ گرفت میں بندھا ہوا۔ مہا گرت ۔ بھاری دلدل ۔نگرت ۔ دھنستا۔ 4) ارداس ۔ عرض ۔ ڈبتے پاہن۔ ڈوبتے پتھر۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان اسے ایاے اعمال کر جس سے نجات حاصل ہو ۔ الہٰی نام سچ حق وحقیقت کی ریاض کر جو اب حیات ہے جس سے زندگی روحانی بن جاتی ہے (1) رہاؤ۔ دیکھتے ہوئے اسکا لطف لیتے ہوئے اسے اندھا کہا جاسکتا ہے ۔ سننتے کے باوجود سنتا نہیں۔ نزدیک بسنے کے باوجود ور سمجھتا ہے گناہگار گناہ کرتا ہے (1) گھوڑوں اور محلات کی محبت میں محصور ہے ۔ جبکہ کوئی چیز ساتھ نہیں جاتی (2) انسانی اپنے خام جسم کا بناؤ سنگار کرتا ہے مگر بدکاریوں اور گناہگاریوں سے ناپاک اور غلیظ ہو چکا ہے اور فرشتہ موت سے سزا پاتا ہے (3) شہوت غصہ لالچ اور دنیا وی محبتمیں محصور ہے گیری اور بھاری دلدل میں غرق ہو رہا ہے (4) اے خدا اپنے خادم کی گذارش سن اور ہمیں ڈوبتے پتھروں کو ڈوبنے سے بچاؤ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
جیِۄتمرےَبُجھےَپ٘ربھُسوءِ॥
تِسُ جن کرمِ پراپتِ ہوءِ ॥੧॥
سُنھِ ساجن اِءُ دُترُ تریِئےَ ॥
مِلِ سادھوُ ہرِ نامُ اُچریِئےَ ॥੧॥ رہاءُ ॥
ایک بِنا دوُجا نہیِ جانےَ ॥
گھٹ گھٹ انّترِ پارب٘رہمُپچھانےَ॥੨॥
جو کِچھُ کرےَ سوئیِ بھل مانےَ ॥
آدِ انّت کیِ کیِمتِ جانےَ ॥੩॥
کہُ نانک تِسُ جن بلِہاریِ ॥
جا کےَ ہِردےَ ۄسہِمُراریِ॥੪॥੧੫॥੨੧॥
لفظی معنی:
جیوت ۔ زندہ ہوتے ہوئے ۔ مرتے ۔ دوران حیات ۔ دنیاوی کاروبار کرتے ہوئے ۔ دنیاوی برائیوں اور گناہگاریاں ترک کرنا۔ جیوت مرنا ہے ۔ لوجھے پربھ سوئے ۔ اسے ہی خدا کی ہستی کی سمجھ آتی ہے ۔ کرم بخشش (1) دتر۔ دشواریوں پر کامیابی ۔ اچرییئے ۔ بیان کریں (1) رہاؤ۔ جانے ۔ سمجھے ۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دل میں۔ برہم ۔ خدا (2) بھل۔ اچھا۔ آدانت۔ اول و آخر۔ قیمت ۔ قدر۔ (3) بلہاری ۔ قربان۔ مراری ۔ خدا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دوست دنیاوی دشوار گذاریوں پر اس طرح سے عبور حاصل ہو سکت اہے کہ خدا رسیدہ پاکدامن سے ملکر الہٰی نام حق سچ وحقیقت کا ذکر کریں (1) رہاؤ۔ جو انسان دنیاوی کاروبار کرنے کے باوجود اس سے لا تعلقی رکھے اس سے محبت نہ رکھے طارق رہے ۔ اسے خدا کی سمجھ آتی ہے یعنی چونکہ سارے عالم کی کاروائی خدا کے زیر فرمان ہونے باوجود اس سے لاتعلق ے ۔ اس طرح سے انسان ہو اسے الہٰی کرم وعنایت حاصل ہوتی ہے (1( خدا کو واحد سمجھے ہر دلمیں اسکو بستا سمجھے (2) جو کچھ خدا کرتا اسے اچھا خیال کرے ۔ مراد اس کی رضا میں راضی رہے ۔ اول و اخرت مراد صدیوی خدا کی قدروقیمت وک سمجھتا ہے ۔ مراد خدا جو کچھ کرتا ہے ۔ اچھا کرتا ہے (3) اے نانک بتادے قربان ہوں اس انسان ہر جس کے دل میں خدا بستا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گُرُ پرمیسرُ کرنھیَہارُ ॥
سگل س٘رِسٹِکءُدےآدھارُ॥੧॥
گُر کے چرنھ کمل من دھِیاءِ ॥
دوُکھُ دردُ اِسُ تن تے جاءِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
بھۄجلِڈوُبتستِگُرُکاڈھےَ॥
جنم جنم کا ٹوُٹا گاڈھےَ ॥੨॥
گُر کیِ سیۄاکرہُدِنُراتِ॥
سوُکھ سہج منِ آۄےَساںتِ॥੩॥
ستِگُر کیِ رینھُ ۄڈبھاگیِپاۄےَ॥
نانک گُر کءُ سد بلِ جاۄےَ॥੪॥੧੬॥੨੨॥
لفظی معنی:
گر۔ مرشد۔ پرمیسور۔ پرم ایشور۔ بھاری مالک ۔ کرنیہار۔ کرنے کی توفیق رکھنے والا۔ سگل۔ ساری ۔ سر شٹ۔ دنیا ۔ علام۔ آدھار۔ آصرا (1) چرن۔ پاؤں۔ کمل ۔ گنول کے پھول کی مانند۔ دھیائے ۔ توجہ دے ۔ دکھ درد۔عذآب (1) رہاؤ۔ بھوجل۔ خوراک زندگی کا سمندر۔ (2) سہج ۔ ذہنی سکون (3) رین ۔ دہول۔ وڈبھاگی بلند قسمت سے ۔ صدبل۔ سو بار قربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو مرشد کی دل سے خدمت کرتا ہے اور اسکی پندونصائح کو دل میں بستا ہے ۔ اسکے ہر قسم کے عذآب مٹ جاتے ہیں (1) رہاؤ خدا اور مرشد کارساز ہیں اور سارے عالم کے لئے اسرا ہے (1) سچا مرشد دنیاوی زندگی میں ناکامیاب کو کامیاب بنات اہے ۔ درینہ ٹوٹے رشتے جو ڑ دیتا ہے (2) مرشد دن رات خدمت کرؤ اس سے ذہنی سکون ملت اہے انسان روحانی طور پر مستقل مزاج بن جاتا ہے (3) اے نانک ۔ سچے مرشد کی دہول بلند قسمت سے نصیبت ہوتی ہے اور قربان ہون مرشد پر ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گُر اپُنے اوُپرِ بلِ جائیِئےَ ॥
آٹھ پہر ہرِ ہرِ جسُ گائیِئےَ ॥੧॥
سِمرءُ سو پ٘ربھُاپناسُیامیِ॥
سگل گھٹا کا انّترجامیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
چرنھ کمل سِءُ لاگیِ پ٘ریِتِ॥
ساچیِ پوُرن نِرمل ریِتِ ॥੨॥
سنّت پ٘رسادِۄسےَمنماہیِ॥
جنم جنم کے کِلۄِکھجاہیِ ॥੩॥
کرِ کِرپا پ٘ربھدیِندئِیالا॥
نانکُ ماگےَ سنّت رۄالا॥੪॥੧੭॥੨੩॥
لفظی معنی:
بل۔ قربان۔ ہر جس۔ الہٰی حمدوثناہ۔ سگل گھٹا۔ سارے دلوں ۔ انتر جامی ۔ اندرونی پوشیدہ راز جاننے والا۔ (1) رہاؤ۔ نرمل ریت ۔ پاک رسم (2) سنت پرساد۔ روحانی رہبروں کی رحمت سے ۔ کل وکھ ۔ گناہ ۔ دوش۔ جرم (3) دین دیالا۔ غریب نواز۔ سنت روالا۔ روحانی رہبروں کی دہول ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یاد کرؤ۔ اس مالک کو سب کے راز دل کے جو جاننے والا ہے (1) رہاؤ۔ قربان ہوجاؤ مرشد پر اور ہر وقت خدا کو یاد کرؤ (1) پیار الہٰی سچا پاک اور کامل زندگی گذارنے کا طریقہ ہے (2) روحانی رہبر کی رحمت سے دل میں بستا ہے ۔ دیرینہ کئے گناہ عافو ہو جاتے ہیں (3) اے غریب نواز غریب پرور خدا کرم وعنایت فرما نانک روحانی رہبروں کی دہول مانگتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
درسنُ دیکھِ جیِۄاگُرتیرا॥
پوُرن کرمُ ہوءِ پ٘ربھمیرا॥੧॥
اِہ بیننّتیِ سُنھِ پ٘ربھمیرے॥
دیہِ نامُ کرِ اپنھے چیرے ॥੧॥ رہاءُ ॥
اپنھیِ سرنھِ راکھُ پ٘ربھداتے॥
گُر پ٘رسادِکِنےَۄِرلےَجاتے॥੨॥
سُنہُ بِنءُ پ٘ربھمیرےمیِتا ॥
چرنھ کمل ۄسہِمیرےَچیِتا॥੩॥
نانکُ ایک کرےَ ارداسِ ॥
ۄِسرُ ناہیِ پوُرن گُنھتاسِ ॥੪॥੧੮॥੨੪॥
لفظی معنی:
پورن کرم۔ خوش قسمتی (1) بینتی ۔ عرض ۔ گذارش ۔ دیہہ۔ نام۔ سچ ۔ حق و حقیقت الہٰی نام عطا کر۔ پیرے ۔ شاگرد۔ چیلے ۔ سکھ (1) رہاؤ۔ سرن۔ زیر پشت پناہ ۔ زیر سایہ ۔ ۔ داتے ۔ اے سخی ۔ گر پرساد۔ رحمت مرشد سے ۔ جاتے ۔ سمجھا (1) بنؤ۔ عرج ۔ چیت۔ دل میں (3) وسر ناہی ۔ بھرے نا۔ پورن گن تاس۔ اوصاف کا مکمل خزانہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا میری عرض سن مجھے حق سچ وحقیقت اپنا الہٰی نام عنایت کو اپناشاگر دسکھ بنا لیجیئے ۔ (1) رہاؤ۔ اے مرشد تیرے دیدار سے میری زندگی روحآنی اور اخلاقی بنتی ہے ۔ یہی میری خوش نصیبی ہے (1) اے سخی خدا پانی پشت پناہی عنایت کر۔ رحمت مرشد سے کسی کو اسکی سمجھ ہے (2) میرے دوست خدا میری گذارش سن تو میرے دل میں بس جا (3) نانک عرض کرتا ہے کہ اے مکمل طور پر اوصاف کے خزانے مجھے نہ بھولنا ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
میِتُ ساجنُ سُت بنّدھپ بھائیِ ॥
جت کت پیکھءُ ہرِ سنّگِ سہائیِ ॥੧॥
جتِ میریِ پتِ میریِ دھنُ ہرِ نامُ ॥
سوُکھ سہج آننّد بِسرام ॥੧॥ رہاءُ ॥
پارب٘رہمُ جپِ پہِرِ سناہ ॥
کوٹِ آۄدھتِسُبیدھتناہِ॥੨॥
ہرِ چرن سرنھ گڑ کوٹ ہمارےَ ॥
کالُ کنّٹکُ جمُ تِسُ ن بِدارےَ ॥੩॥
نانک داس سدا بلِہاریِ ॥
سیۄکسنّتراجاراممُراریِ॥੪॥੧੯॥੨੫॥
لفظی معنی:
میت ۔ ساجن۔ دوسرت۔ ست۔ بیٹا ۔ بندھپ۔ رشتہ دار۔ جت کت۔ جہاں کہیں۔ پیکھو۔ دیکھتے ہو ۔ ہر سنگ سہائی ۔ خدا ساتھ اور مددگار ہے (1) جت ۔ ذات ۔ پت۔ عزت۔ دھن۔ سرمایہ۔ ہر نام۔ الہٰی نام ۔ سچ حق وحیقت۔ سوکھ ۔ آرام و آسائش ۔ سہج مستقل مزاجی ۔ روحانی یا زہنی سکون ۔ بسرام۔ آرام (1) رہاؤ۔ سناہ ۔ کوچ۔ زردہ بکتر۔ کوٹ اودھ ۔ کروڑوں ہتھیار۔ بیدھت۔ زخم نہیں لگا سکتے (2) گڑھ کوت۔ قلعے ۔ کال۔موت ۔ کنٹک۔ کانٹا۔ بدارے ۔ مٹا سکتا ۔ سدا ۔ ہمیشہ۔ بلہاری ۔ قربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام سچ حق وحقیقت ہی انسان کے لئے ذات عزت اور سرمایہ ہے ۔ اسکی بدولت ہی روحانی وزہنی سکون روحانی خوشی اور آرام و آسائش ملتے ہیں (1) رہاؤ۔ جہاں کہیں نظر جاتی ہے خدا ساتھی و مددگار ہے ۔ خدا ی دوست ۔ مددگار ۔ رشتہ دار بیٹا اور بھائی ہے (1) الہٰی ریاض کر یہ ایک زرہ بکتر ہے ۔ کروڑوں ہتھیار اسے کاٹ نہیں سکتے ۔ یا رعم پہنچا نہین سکتے (2) انسان کے لئے الہٰی پشت پناہی ہی قلعے ہیں۔ موت کا عذاب بھی اسے مٹا نہیں سکتا (3) اے نانک۔ اے خدا نانک تیرے خدمتگاروں روحانی رہبروں پر ہمیشہ قربان ہوں۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گُنھ گوپال پ٘ربھکےنِتگاہا॥
اند بِنود منّگل سُکھ تاہا ॥੧॥
چلُ سکھیِۓپ٘ربھُراۄنھجاہا॥
سادھ جنا کیِ چرنھیِ پاہا ॥੧॥ رہاءُ ॥
کرِ بینتیِ جن دھوُرِ باچھاہا ॥
جنم جنم کے کِلۄِکھلاہاں ॥੨॥
منُ تنُ پ٘رانھجیِءُارپاہا॥
ہرِ سِمرِ سِمرِ مانُ موہُ کٹاہاں ॥੩॥
دیِن دئِیال کرہُ اُتساہا ॥
نانک داس ہرِ سرنھِ سماہا ॥੪॥੨੦॥੨੬॥
لفظی معنی:
گاہا۔ گاؤ۔ اند۔ خوشی۔ ونود۔ تماشے ۔ تاہا۔ تہاں (1) پربھ راون۔ خدا کے ملاپ کا لطف اُٹھائیں۔ پاہا۔ پڑیں (1) رہاؤ۔ جن دہوریا بھاہا۔ خدمتگار کو دہول چاہییے ۔ کل وکھ ۔ گناہ ۔ جرم (2) ارپاہا۔ بھینٹ۔ موہ گٹاہا ۔ محبت خرم کریں۔ (3) اتساہا۔ کوشش۔ ہر سرن۔ الہٰی پشت پناہ ۔ سماہا۔ محو ومجذوب۔
ترجمہ معہ تشریح:
او ساتھی الہٰی ملاپ کا لطف حاصل کریں۔ اور پاکدامن خدا رسیدہ کی پشت پناہ لیں (1) رہاوؤ۔ ہر روز الہٰی حمدوچناہ کریں اس میں ہی خوشیاں اور تماشے اور آرام و آسائش ہے (1) عرض کرکے پاکدامن انسانوں کی دہول مانگیں تاکہ دیریہن کے لئے ہوئے گناہ عافو ہو جائیں۔ (2) اپنا دل و جان انکو بھینٹ کردیں۔ الہٰی حمدوثناہ سے دنایوی محبت دل سے مٹادیں (3) اے نانک۔ غریب نواز رحمان الرحیم خدا سے عرض گذر کہ ہمارے دل میں جوش و بلوے پیدا کرے کہ ہم تیرے خدمتگاروں کی پشت پناہ میں رہیں۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
بیَکُنّٹھ نگرُ جہا سنّت ۄاسا॥
پ٘ربھ چرنھ کمل رِد ماہِ نِۄاسا॥੧॥
سُنھِ من تن تُجھُ سُکھُ دِکھلاۄءُ॥
ہرِ انِک بِنّجن تُجھُ بھوگ بھُنّچاۄءُ॥੧॥ رہاءُ ॥
انّم٘رِتنامُبھُنّچُمنماہیِ॥
اچرج ساد تا کے برنے ن جاہیِ ॥੨॥
لوبھُ موُیا ت٘رِسنابُجھِتھاکیِ॥
پارب٘رہمکیِسرنھِجنتاکیِ॥੩॥
جنم جنم کے بھےَ موہ نِۄارے॥
نانک داس پ٘ربھکِرپادھارے॥੪॥੨੧॥੨੭॥
لفظی معنی:
بیکنٹھ نگر۔ جنت ہے وہ شہر۔ سنت داسا۔ جہاں روحانی رہبر بستاہے ۔ ردھ ۔ دلمیں۔ نواسا۔ بستا ہے (1) انکبنجن۔ بیشمار الہٰی کھانے ۔ بھوگ بھنچاو۔ کھلاوں۔ سن ۔ سنکر۔ من تن۔ دل و جان۔ وکھاوؤ۔ وکھلا ئیں۔ (1) رہاو۔ انمرت نام۔ الہٰی نام۔ سچ حق و حقیقت جو صدیوی ہے جس سے زندگی اخلاقی و روحآنی بنتی ہے آب حیات ہے ۔ بھنچ من ماہی ۔ دلمیں بسا۔ اچرج ساد۔ حیرنا کرنے والے لطف و مزے ۔ برن بیاں (2) نوارے ۔مٹاتا ہے دور کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان سن تجھے دل و جان کے لئے آرام و آسائش دکھاؤں ( الہٰی نام سچ حق وحقیقت ) خدا بیشمار پر لطف کھانے ہے تجھے وہ کھانے کھلائیں (1) رہاؤ۔ جہاں خدا رسیدہ پاکدامن روحانی رہبر (سنت) بستے وہ گاوں یا شہر جنت یا بہشت ہے ۔ وہاں پاک خدا دل میں بستا ہے (1) اے انسان الہٰی نام حق سچ حقیقت صدیوی نام دلمیں بسا اس کے لطف اور مزے حیران کرنے والے ہیں جو بیان سے باہر ہیں (2) لالچ مٹ جات اہے خواہشات ختم ہو جاتی ہے ۔ جنہوں نے خدا کو اپنی پشت پناہ بنائیا (3) اے نانک۔ خدا اپنےخادموں پر پانی کرم وعنایت فرماتا ہے ان کے دیرینہ خوف آور دنیاوی محبت مٹا دیتاہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
انِک بیِݩگداسکےپرہرِیا॥
کرِ کِرپا پ٘ربھِاپنا کرِیا ॥੧॥
تُمہِ چھڈاءِ لیِئو جنُ اپنا ॥
اُرجھِ پرِئو جالُ جگُ سُپنا ॥੧॥ رہاءُ ॥
پربت دوکھ مہا بِکرالا ॥
کھِن مہِ دوُرِ کیِۓدئِیالا॥੨॥
سوگ روگ بِپتِ اتِ بھاریِ ॥
دوُرِ بھئیِ جپِ نامُ مُراریِ ॥੩॥
د٘رِسٹِدھارِلیِنولڑِلاءِ॥
ہرِ چرنھ گہے نانک سرنھاءِ ॥੪॥੨੨॥੨੮॥
لفظی معنی:
بینگ ۔ غلطیاں ۔ داس۔ خادم۔ ہریا۔ مٹائے (1) ارجھ ۔ الجھاؤ۔ سپنا۔ خواب ۔ رہاؤ۔ پریت۔ پہاڑ۔ مہاد کر لا ۔ بھاری ڈراؤنا۔ کھن میہہ۔ آنکھ جھپکنے کی دیرمیں (2) سوگ افسوس۔ روگ۔ بیماری ۔ بپت۔ مصیبت۔ ات ۔ نہایت ۔ ۔جپ نام ۔ الہٰینام کی ریاض سے (3) درسٹ دھار۔ نظر عنایت و شفقت۔ لینے لڑ لائے ۔ دامن پکڑائیا۔ چرن گہے ۔ پاوں پکڑے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ عالم جو ایک خواب کی مانند ہے ۔ اے انسان تو (اسکی ) اسکے ثناہ میں پھنس گیا ہے ۔ خدا اپنے خدمتگار کو اس سے خود نجات دلاتا ہے (1) رہاؤ۔ خدا اپنے خدمتگاروںکی بیشمار غلطیوں کو درست کرتا ہے اور اپنی کرم وعنایت سے اپناتا ہے (1) پہا جتنے بھاری خوفنکا۔ عیب تھوڑے سے وقفے میں ہی مہربان خدا نے دور کر دیئے (2) افسوس فکر و تشویش بیماری اور بھاری مصیبتیں الہٰینام کی ریاض سے دور ہوئیں (3) اے نانک۔ الہٰی پشت پناہ سے خدا نے نظر عنایت و شفقت کی اور دامن دیا۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
دیِنُ چھڈاءِ دُنیِ جو لاۓ॥
دُہیِ سرائیِ کھُنامیِ کہاۓ॥੧॥
جو تِسُ بھاۄےَسوپرۄانھُ॥
آپنھیِ کُدرتِ آپے جانھُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
سچا دھرمُ پُنّنُ بھلا کراۓ॥
دیِن کےَ توسےَ دُنیِ ن جاۓ॥੨॥
سرب نِرنّترِ ایکو جاگےَ ॥
جِتُ جِتُ لائِیا تِتُ تِتُ کو لاگےَ ॥੩॥
اگم اگوچرُ سچُ ساہِبُ میرا ॥
نانکُ بولےَ بولائِیا تیرا ॥੪॥੨੩॥੨੯॥
لفظی معنی:
دین ۔ دھرم۔ الہٰی راہ ۔ دنی ۔ دنیاوی ۔ وہی سرائی۔ ہر دو عالموں میں ۔ خنامی ۔ بدنامی (1) بھاوے ۔ چاہتا ہے ۔ رضا۔ پرونا۔ منظور۔ قدرت۔ طاقت۔ قوت ۔ توفیق () رہاؤ۔ سچا۔ صدیوی ۔ دھرم ۔ راستہ ۔ عقیدہ ۔ پن۔ ثواب۔ بھلا۔ نیک۔ دین کے تو سے ۔ ایمان یا عقیدت کے خزانے یا دولت سے ۔ دنی ۔ دنیا (2) سرب ۔ سارے ۔ نرنتر۔ دل میں۔ ایکو جاگے ۔ واحد الہٰینور ہے (3) جت جت ۔ جہاں جہاں ۔ تت تت ۔ وہاں وہاں (3) اگم۔ انسانی رسائی سے بلند یا بعید ۔ اگوچر ۔ جو بیان نہ ہو سکے ۔ سچ ۔ صدیوی حقیقت ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کو اپنی توفیق و طاقت کی خود ہی پہچان ہے ۔ جو چاہتا ہے وہی منظور ار قابل قبول ہوتا ہے (1) رہاؤ۔ جو حقیقت اور فرض شناسی چھوڑ دنیاوی محبت مصروف ہوجاتا ہے ۔ یہ دو عالموںمیں بدنام ہوتا ہے (1) سچا صدیوی فرض نیک اور اچھے کام کراتا ہے ۔ فرض شناسی اور فرض ادا کرنے سے اور نکی کے خزانے سے دنیاواری بھی خراب نہیں ہوتی (2) سب کے واحد خدا کا نور روشنی دے رہا ہے ۔ جس طرف خدا لگاتا ہے انسان اسی طرف لگتا ہے (3) میرا خدا انسانی رسائی اور بیان سے بعید ہے ۔ نانک اے خدا تیرا بولائیا بولتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
پ٘راتہکالِہرِنامُاُچاریِ॥
ایِت اوُت کیِ اوٹ سۄاریِ॥੧॥
سدا سدا جپیِئےَ ہرِ نام ॥
پوُرن ہوۄہِمنکےکام॥੧॥ رہاءُ ॥
پ٘ربھُابِناسیِریَنھِ دِنُ گاءُ ॥
جیِۄتمرتنِہچلُپاۄہِتھاءُ॥੨॥
سو ساہُ سیۄِجِتُتوٹِنآۄےَ॥
کھات کھرچت سُکھِ اندِ ۄِہاۄےَ॥੩॥
جگجیِۄنپُرکھُسادھسنّگِپائِیا॥
گُر پ٘رسادِنانکنامُدھِیائِیا॥੪॥੨੪॥੩੦॥
لفظی معنی:
پراتیہ کال۔ علے الصبح ۔ صبح سویرے ۔ اچاری۔ ریاض کرؤ ۔ ۔ ایت ۔ اوت۔ یہاں اور وہاں۔ ہر دو عالموں ۔ اوت۔ آسرا (1) ہر نام ۔ الہٰی نام۔ پورن ۔ مکمل۔ من کے کام۔ دلی ارادے (1) رہاو۔ پربھ ابناسی۔ لافناہ خدا۔ رین ۔ دن روز و شب۔ دن رات۔ جیوت مرت۔ زندہ یا مرادہ ۔ نہچل۔ مستقل ۔ تھاؤ ۔ٹھکانہ (2) ساہو۔ شاہوکار ۔ سیو۔ خدمت کر۔ توٹ ۔ کمی ۔ سکھ انند دہاوے ۔ آرام و آسائش میں گذرے (2) سادھ سنگ ۔ صحبت و قربت پاکدامن۔ گر پرساد۔ رحمت مرشد سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام سچ حق وحقیقت کی یادویراض سے دلی ارادے پایہ تکمیل تک پہنچتے ہیں (1) رہاؤ۔ صبح سویرے علے الصبح الہٰینام کی ریاض کرو۔ اس سے ہر دو عالم کا آسرا درست ہو جاتا ہے (1) خداکی روز و شب حمدوچناہ کرؤ۔ اس سے دوران حیات اسکی محبت چھوڑنے سے مستقل ٹھکانہ ملتا ہے (2) ایسے شاہوکار کو اپناؤ جس کے اپنانے سے کبھی کمی واقعنہ ہو۔ کاھتے پیتے آرام و سکون میں گذرے (3) خدا رسیدہ پاکدامن کی صحبت و قربت عالم کو زندگی بخشنے والے خدا کا وصل حاصل ہوا ۔ رحمت مرشد سے نانک نے الہٰینام میں دھیان لگائیا۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گُر پوُرے جب بھۓدئِیال॥
دُکھ بِنسے پوُرن بھئیِ گھال ॥੧॥
پیکھِ پیکھِ جیِۄادرسُتُم٘ہ٘ہارا॥
چرنھ کمل جائیِ بلِہارا ॥
تُجھ بِنُ ٹھاکُر کۄنُہمارا॥੧॥ رہاءُ ॥
سادھسنّگتِ سِءُ پ٘ریِتِ بنھِ آئیِ ॥
پوُرب کرمِ لِکھت دھُرِ پائیِ ॥੨॥
جپِ ہرِ ہرِ نامُ اچرجُ پرتاپ ॥
جالِ ن ساکہِ تیِنے تاپ ॥੩॥
نِمکھ ن بِسرہِ ہرِ چرنھ تُم٘ہ٘ہارے॥
نانک ماگےَ دانُ پِیارے ॥੪॥੨੫॥੩੧॥
لفظی معنی:
گرپورے ۔ کامل مرشد۔ دیال ۔ مہربان۔ ونسے ۔مٹے ۔ گھال ۔ محنت و مشقت۔ (1) درس۔ ودیدار ۔ٹھاکر۔ آقا۔مالک ۔ رہؤ۔ سادھ سنگت۔ صحبت و قربت پاکدمناں۔ پریت ۔ پیار۔ پورب کرم۔ پہلے کئے ہوئے اعمال۔لکھت ۔ تحریر۔ اچرج ۔ حیران کرنے والا۔ پرتاپ۔ برکت ۔ طاقت ۔ تینے تاپ۔ تاپ ۔ عذآب۔ تکلیف۔ ذہنی بیماری ۔ شک و شبہات (3) نمکھ ۔تکلیف جھپکنے کے وقفے کےلئے ۔ دان۔ خیرات۔ بھیک۔
ترجمہ معہ تشریح:
دیدار سے ملتی ہے روحانی واخلاقی زندگی قربان ہوں تیرے پاؤں پر اے مری آقا تیرے بغیر کون میرا ہے (1) رہاؤ۔ جب کامل مرشد مہربان ہوتا ہے ۔ تو عذآب مٹ جاتا ہے محنت و مشقت کی ہوئی برآور ہوتی ہے (1) پاکدامن ساتھیوں سے میری محبت ہوگئی جیا کہ پہلے سے کئے ہوئے اعمالنامے مں تحریر اعمال تھے (2) الہٰی نام کی ریاض میں ایسی طاقت ہے کہ تینوں قسم کے عذاب ذہنی جسمانی اور شک و شبہات روحانی زندگی یعنی نیک اعمال میں اثر انداز نہیں ہو سکتے ۔ (3) نانک اے خدا یہبھیک مانگتا ہے کہ آنکھ جھپکنے کے وقفے کے لئے بھی تو نہ بھولے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
سے سنّجوگ کرہُ میرے پِیارے ॥
جِتُ رسنا ہرِ نامُ اُچارے ॥੧॥
سُنھِ بینتیِ پ٘ربھدیِندئِیالا॥
سادھ گاۄہِگُنھسدارسالا॥੧॥ رہاءُ ॥
جیِۄنروُپُسِمرنھُپ٘ربھتیرا॥
جِسُ ک٘رِپاکرہِبسہِ تِسُ نیرا ॥੨॥
جن کیِ بھوُکھ تیرا نامُ اہارُ ॥
توُنّ داتا پ٘ربھدیۄنھہارُ॥੩॥
رام رمت سنّتن سُکھُ مانا ॥
نانک دیۄنہارسُجانا॥੪॥੨੬॥੩੨॥
لفظی معنی:
سے سنجوگ ۔ ایسے موقعے ۔ رسنا۔ زبان۔ اچارے ۔ کہے (1) دین دیالا۔ غریب نواز۔ سادھ ۔ وہ انسان جس نے زندگی کا راہ راست اختیار کرلیا اور اپنالیا ۔ رسالا۔ پر لطف طور پر ۔ (1) رہاؤ۔ نیرا۔ نزدیک (2) نام۔ سچ حق وحقیقت ۔ آہار۔ خوراک ۔ کھانا (3) رام۔ رمت۔ الہٰی محویت سنتن۔ پاکدامن روحانی رہبر۔ سکھ مانا۔ رحمت محسوس کی ۔ ویانہار۔ دینے والا۔ سجانا۔ دانشمند۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے غریب پرور غریب نواز خدا میری عرض سنیئے کہ راہ راست پر چلنے والے انسان ہمیشہ پر لطف انداز مین تیرے اوصاف کی مدح سرائی کرتے ہیں (1) رہاؤ۔ اے میرے پیارے ایسے موقع اپناؤ جس میں زبان سے الہٰی نام سچ حق وحقیقت بیان ہو (1) اے خدا تیری یادوریاض ہی زندگی ہے ۔ جس پر تیری کرم و عنیات ہوتی ہے ۔ اسے تیری قربت نصیب ہوتی ہے (2) تیرے خادم کو تیرے نام کی بھوک رہتی اور تیرا نام ہی اسکے کے لئے خوراک دکھانا ہے اور تو دینے والا سختی ہے (3) روحانی رہبر اے خدا تجھ میں محو ومجذوب ہونے میں راحت محسوس کرتے ہیں۔ اے نانک۔ دینے کی توفیق رکھنے واا دانشمند ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
بہتیِ جات کدے د٘رِسٹِندھارت॥
مِتھِیا موہ بنّدھہِ نِت پارچ ॥੧॥
مادھۄےبھجُدِننِتریَنھیِ॥
جنمُ پدارتھُ جیِتِ ہرِ سرنھیِ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کرت بِکار دوئوُ کر جھارت ॥
رام رتنُ رِد تِلُ نہیِ دھارت ॥੨॥
بھرنھ پوکھنھ سنّگِ ائُدھ بِہانھیِ ॥
جےَ جگدیِس کیِ گتِ نہیِ جانھیِ ॥੩॥
سرنھِ سمرتھ اگوچر سُیامیِ ॥
اُدھرُ نانک پ٘ربھانّترجامیِ॥੪॥੨੭॥੩੩॥
لفظی معنی:
بہتی جات ۔ عمر گذر رہی ہے ۔ درسٹ نہ دھارت۔ غور ارو توجو نہیں کر رہا۔ متھیا۔ جھوٹا۔ پارچ۔ کپڑے (1) مادہو ے ۔ اے خدا۔ بھج۔ یاد کر۔ نت۔ ہر روز۔ دن رینی ۔ روز و شب۔ دن رات (1) رہاؤ۔ کرت بکار۔ برے کام کرکے دو۔ دونوں ۔ کر ۔ ہاتھ۔ جھارت۔ جھاڑتا ہے ۔ رام رتن ۔ قیمتی نام ۔ تل ۔ تھوڑا سا۔ دھارت۔ بساتا (2) بھرن پوکھن۔ پیٹ کے بھرنے ۔ اودھ ۔ عمر۔ بہانی ۔ گذری ۔ جگدیس۔ مالک علا۔ گت۔ حالت (3) سرن۔ سمرتھ۔ پشتپناہ کی توفیق ۔ اگوچر سوآمی ۔ جو بیان سے با ہر ہے مالک۔ ادھر۔ بچاو۔ انتر جامی ۔ اندرونی پوشیدہ راز جاننے والے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان روز و شب یا د خدا کو کر ۔ الہٰی پشت پناہی سے قیمتی زندگی کو کامیاب بنا (1) رہاؤ۔ اے انسان تیری عمر گذر رہی ہے اس طرح اپنا دھیان نہیں دے رہا۔ جھوتی محبت کے منصوبے بنا رہا ہے (1) دونوں خالی ہاتھوں سے برے کام کر رہا ہے ۔ مرا دایسے کام کر رہا ہے جس سے تیری عاقبت کے لئے کچھ تیرے دامن نہیں پڑ رہا خدا کو تھوڑے سے عرصے کے لئے بھی دل میں نہیں بساراہ (2) پیٹ بھرنےمیں ہی عمر گذار دی ۔ خدا کی قدروقیمت کی پہچان نہیں کی (3) قابل پشت پناہی کے توفیق رکھنے والے جو انسانی عقل و ہوش سےا سے بیان کیا جا سکتا ۔ اے پوشیدہ اندرونی ولی راز جاننے والے نانک کو بچاتے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
سادھسنّگِ ترےَ بھےَ ساگرُ ॥
ہرِ ہرِ نامُ سِمرِ رتناگرُ ॥੧॥
سِمرِ سِمرِ جیِۄانارائِنھ॥
دوُکھ روگ سوگ سبھِ بِنسے گُر پوُرے مِلِ پاپ تجائِنھ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جیِۄنپدۄیِہرِکاناءُ॥
منُ تنُ نِرملُ ساچُ سُیاءُ ॥੨॥
آٹھ پہر پارب٘رہمُدھِیائیِئےَ॥
پوُربِ لِکھتُ ہوءِ تا پائیِئےَ ॥੩॥
سرنھِ پۓجپِدیِندئِیالا॥
نانکُ جاچےَ سنّت رۄالا॥੪॥੨੮॥੩੪॥
لفظی معنی:
سادھ سنگ ۔ صحبت پاکدامن ۔ خدا رسیدہ کے ساتھ ۔ بھے ساگر ۔ خوف کا سمندر۔ ہرنام ۔ الہٰی نام۔ رتنا گر۔ بیروں کی کان مراد جو بیشمار بیش قیمت ہے (1) نارائن ۔ اے خدا ۔ دوکھ ۔ عذآب ۔ نکلنا ۔ ونسے ۔ مٹۓ ۔ گر پورے کامل مرشد۔ پاپ تجائن۔ گناہوں یا برائیوں کے تدارک سے چھور کر (1) رہاؤ۔جیون پدوی ۔ زندگی کا رتبہ ۔ اعلے زندگی ۔ ہرکا ناوں ۔ الہٰی نام ۔ سچ حق و حقیقت ۔ من تن۔ دل وجان۔ نرمل۔ پاک۔ ساچ سواؤ۔ حقیقی مقصد (2) جاجے ۔ مانگتا ہے ۔ چاہتا ہے ۔ سنت روالا ۔ روحانی رہبروں کی دہول ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تیری یادوریاضت سے روحانی واخلاقی زندگی بنتی ہے ۔ ملاپ مرشد سے گناہگاریوں کا تدارک ہوتا ہے ۔ تشویش فکر عذاب اوربیماریاں مٹجاتی ہے ۔ رہاؤ۔ صحبت اور ساتھ پاکدامنسے زندگی کامیاب ہوتی ہے ۔ الہٰی نام سچ حق و حقیقت ایک ہیروںکی کان مراد یقمتی ہے (1) الہٰی نام ایک بلند رتبہ والی روحانی زندگی ہے یعنی اسی سے زندگی روحانیت پرست بنتی ہے ۔ دل وجان پاک ہوجاتی ہے یہی زندگی کا مدعا و مقصد حقیقی ہے (2) ہر وقت خدا میں دھیان لگاو۔ یہ نعمت تبھی مسیر ہوتی ہے ۔ اگر خدا کی طرف سے پہلے سے اعمالنامے میں تحریر ہو (3) جو الہٰی پشت پناہ میں الہٰی حمدوثناہ کرتے ان کی دہول مانگتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
گھر کا کاجُ ن جانھیِ روُڑا ॥
جھوُٹھےَ دھنّدھےَ رچِئو موُڑا ॥੧॥
جِتُ توُنّ لاۄہِتِتُتِتُلگنا ॥
جا توُنّ دیہِ تیرا ناءُ جپنا ॥੧॥ رہاءُ ॥
ہرِ کے داس ہرِ سیتیِ راتے ॥
رام رسائِنھِ اندِنُ ماتے ॥੨॥
باہ پکرِ پ٘ربھِآپےکاڈھے॥
جنم جنم کے ٹوُٹے گاڈھے ॥੩॥
اُدھرُ سُیامیِ پ٘ربھکِرپادھارے ॥
نانک داس ہرِ سرنھِ دُیارے ॥੪॥੨੯॥੩੫॥
لفظی معنی:
کاج۔ کام ۔ روڑ۔سوہنا۔ موڑا۔ بیوقوف۔ نالائق (1) جت ۔ جہاں۔ جس طرف۔ تت تت ۔ وہیں وہیں ۔ جپنا۔ ریاج کرنی (1) رہاؤ۔ داس۔ خادم۔ خدمتگار ۔ سرن ۔ نشت پناہ۔ دوآرے ۔ در پر ۔ ہر سیتی راتے ۔ خد امیں محو ومجذوب ۔ رسائن ۔ لطف کا گھر ۔ مانے محو (2 ) ٹوٹے گاؤھے ۔ قطعتعلق کا رشتہ بنائیا (3) ادھر ۔ بچاؤ۔ کر پا دھارے ۔ کرم وعنیات سے ۔ ہر سرن دوآرے ۔ الہٰی در پر پشت پناہ میں۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا جس کام میں ہمیں لگاتاہے اس میں ہم لگتے ہیں ۔ جب تو اپنا نام (سچ ) عنایت کرتا ہے تب تیرے نام کی ریاض کرتے ہیں (1) رہاؤ۔ انسان جھوٹے کاموں میں محو ہے ۔ دل کے ہیں (1) رہاؤ۔ انسان جھوٹے کاموں می محو ہے ۔ دل کے کاموں سے نا قاف ہے (1) الہٰی خادم الہٰی پیارمیں محو ومجذوب رہتے ہیں۔ خدا جو لطفوںکی کان ہے دن رات محو رہتے ہیں (2) خدا خود اپنی امداد سے خود نکالتا ہے ۔ا ور دیرنہ ٹوٹے ہوئے رشتوں کو خود ہی جوڑتا ہے (3) اے خادم نانک۔ اے خدا اپنی کرم و عنایت سے بچاے میں تیرے درپر تیری پشت پناہ میںہوں۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
سنّت پ٘رسادِنِہچلُگھرُپائِیا॥
سرب سوُکھ پھِرِ نہیِ ڈد਼لائِیا ॥੧॥
گُروُ دھِیاءِ ہرِ چرن منِ چیِن٘ہ٘ہے॥
تا تے کرتےَ استھِرُ کیِن٘ہ٘ہے॥੧॥ رہاءُ ॥
گُنھ گاۄتاچُتابِناسیِ॥
تا تے کاٹیِ جم کیِ پھاسیِ ॥੨॥
کرِ کِرپا لیِنے لڑِ لاۓ॥
سدا اندُ نانک گُنھ گاۓ॥੩॥੩੦॥੩੬॥
لفظی معنی:
سنت پرساد۔ روحانی رہبر کی رحمت سے ۔ نہچل۔ صدیوی مستقل ۔ سرب۔ سارے ۔ سوکھ ۔ آرام و آسائش ۔ ڈولایا ۔ ڈگمگائیا ۔ (1) چینے ۔ پچھانے ۔ استھر۔ پائیدار (1) رہاؤ۔ اچت۔ مستقل۔ ابناسی ۔ لافناہ (2) سدا انند۔ صدیوی سکون وخوشی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جنہوں نے مرشد کے توجہ دلانے پرخدا پہچانا ۔ خدا نے انہیں مستقل مزاج بنائیا۔ رہاؤ۔ روحانی رہبر کی رحمت سے مستقل مزاج ہوئے ہر طرح کا آرام و آسائش پائیا اور نہ ڈگمگائے ۔ بھٹکے (1) جنہوننے لافناہ خدا کی حمدوثناہ اور حمدوثناہ کی برکت سے روحانی موت کا پھندہ کٹ گیا (2) اے نانک۔ خدا نے اپنی کرم وعنایت سے اپنا دامن تھمائیا اور صفت صلاح سے سکون بھری خوشی حاصل کی ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
انّم٘رِتبچنسادھکیِبانھیِ॥
جو جو جپےَ تِس کیِ گتِ ہوۄےَہرِہرِنامُنِترسنبکھانیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
کلیِ کال کے مِٹے کلیسا ॥
ایکو نامُ من مہِ پرۄیسا॥੧॥
سادھوُ دھوُرِ مُکھِ مستکِ لائیِ ॥
نانک اُدھرے ہرِ گُر سرنھائیِ ॥੨॥੩੧॥੩੭॥
لفظی معنی:
انمرت۔ آب ھیات۔ ایسا پانی جس سے زندگی صدیوی روحانی واخلاقی بنتی ہے ۔ بچن۔ بول ۔ کلام۔ بانی ۔ کلام ۔ گت۔ بلند روحانی حالت ۔ رسن۔ زبان۔ بکھانی ۔ بیان کرنا (1) رہاؤ۔ کلی کال۔ زندگی کے جھگڑے ۔ ویسا۔ دخل (1) ادھرے ۔بچے ۔مستک ۔پیشانی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
پاکدامن انسان کی زبان سے نکلے ہوئے الفاط آپ حیات ہوتے ہں اس زندگی روحانی اور اخلاقی طور پر بلند رتبے والی زندگی بسر کرتا ہے اور ہمیشہ زبان سے الہٰی نام سچ حق و حقیقت کہا ہے (1) رہاؤ۔ اس جھگڑوں بھری زندگی کے جھگڑے مٹ جاتے ہیں اور دل میں الہٰی نام بس جاتا ہے (1) اے نانک۔ خاک پائےپاکدامن لگائی ہے ۔ جس نے اور مرشد کی اور خدا کی پشت پناہی سے بچاؤہوا۔

سوُہیِ مہلا ੫ گھر ੩॥
گوبِنّدا گُنھ گاءُ دئِیالا ॥
درسنُ دیہُ پوُرن کِرپالا ॥ رہاءُ ॥
کرِ کِرپا تُم ہیِ پ٘رتِپالا॥
جیِءُ پِنّڈُ سبھُ تُمرا مالا ॥੧॥
انّم٘رِتنامُچلےَجپِنالا॥
نانکُ جاچےَ سنّت رۄالا॥੨॥੩੨॥੩੮॥
لفظی معنی:
مہربان رحمان الرحیم خدا کی حمدوثناہ کرو اے مہربان خدا دیدار دیجیئے (1) رہاؤ۔ اے خدا تو ہی اپنی کرم وعنایت سے پرورش کرتا ہے یہ روح اور جسم تیرا ہی دیا ہوا سرمایہ ہے ۔ اے انسان الہٰی نام سچ حق و حقیقت کی یادوریاض کیا کر جو انسان کے ساتھ جانے وال اہے ۔نانک روحانی رہبروں کی دہول مانگتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
تِسُ بِنُ دوُجا اۄرُنکوئیِ॥
آپے تھنّمےَ سچا سوئیِ ॥੧॥
ہرِ ہرِ نامُ میرا آدھارُ ॥
کرنھ کارنھ سمرتھُ اپارُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
سبھ روگ مِٹاۄےنۄانِرویا॥
نانک رکھا آپے ہویا ॥੨॥੩੩॥੩੯॥
لفظی معنی:
آدھار ۔ آسرا ۔ تھمے ۔ سہارا ۔ کرن کارن سمرتھ ۔ کرنے کرانے کی توفیق رکھنے والا۔ رہاؤ۔ روگ ۔ بیماری ۔ نوا ۔ نوجان ۔ نروآ۔تندرست۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کارساز جو کرنے اور کرانے کی بیشمار توفیق رکھتا ہے اسکا نام میری بنیاد اور آسرا ہے ۔ رہاؤ۔ اس کے بغیر دوسری کوئی ایسی ہست ی نہیں۔ وہ صدیوی سہارا دینے والا پاک ہستی اور دائمی ہے (1) اے نانک جسکا محافظ ہے خدا وہ نوجوان تندرست ہوجاتا ہے اور بیماریاں مٹا دیتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
درسن کءُ لوچےَ سبھُ کوئیِ ॥
پوُرےَ بھاگِ پراپتِ ہوئیِ ॥ رہاءُ ॥
سِیام سُنّدر تجِ نیِد کِءُ آئیِ ॥
مہا موہنیِ دوُتا لائیِ ॥੧॥
پ٘ریمبِچھوہاکرت کسائیِ ॥
نِردےَ جنّتُ تِسُ دئِیا ن پائیِ ॥੨॥
انِک جنم بیِتیِئن بھرمائیِ ॥
گھرِ ۄاسُندیۄےَدُترمائیِ॥੩॥
دِنُ ریَنِ اپنا کیِیا پائیِ ॥
کِسُ دوسُ ن دیِجےَ کِرتُ بھۄائیِ॥੪॥
سُنھِ ساجن سنّت جن بھائیِ ॥
چرنھ سرنھ نانک گتِ پائیِ ॥੫॥੩੪॥੪੦॥
لفظی معنی:
لوچے ۔ چاہتا ہے ۔ خواہش کرتا ہے ۔ بورے بھاگ۔ بلند قسمت سے ۔ سیام سندر۔ خدا۔ نیند۔ آرام۔ مہا موہنی ۔ اپنی محبت کی گرفت میں لے لیتے والی ۔ دوتا دشمن۔ (1) پریم پچھوہا۔ پیار سے جدائی۔ گسائی ۔ کشش۔ نروے ۔بیرحم۔ دیا۔ رحم (2) بیتین۔ گذرے ۔ بھرمائی ۔ بھٹکن میں (2) دن رین ۔ روز و شب۔ دوس۔ الزام۔ کرت بھوائی۔ اعمال کا نتیجہ (4) ساجن۔ دوست۔ سنت۔ اے روحانی رہبر۔ چرن سرن۔ پشت پناہ پائے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
دیدار کی خواہش تو سب کرتے ہیں۔ بلند قسمت سے حاصل ہوتی ہے (1 ) رہاؤ۔ خوبصورت پیارے خدا کی جدائی سے کیسے آرام پائیا انسان ان انسانیت دشمن دشمنوں نے یہ دنیاوی دولت کی گرفت میں گرفتار کرا دیا (1) پیار کی جدائی کی کشش اس بیرحم طالم نے مجھ میں ڈالی (2) جس سے بھار ی وقت بہت دیر تک بھٹکتا رہا بھٹکن میں گزری ۔ اس ناقابل ۔ تسخیر دنیایو دلوت نے دلمیں بسانے نہ دیا (3) اور اپنے کئے اعمال کی جوہ سے بھٹکن میں گذارے ۔ اسکا الزام کسی پر نہیں لگائیا جا سکتا ایسے عمر گذری (4) اے روحانی رہبر دوست ۔ سنیئے نانک۔ الہٰی پاؤں کی پشت پناہی سے روحانی واخلاقی زندگی ملتی ہے ۔

راگُ سوُہیِ مہلا ੫ گھرُ ੪
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
بھلیِ سُہاۄیِ چھاپریِ جا مہِ گُن گاۓ॥
کِت ہیِ کامِ ن دھئُلہر جِتُ ہرِ بِسراۓ॥੧॥ رہاءُ ॥
اندُ گریِبیِ سادھسنّگِ جِتُ پ٘ربھچِتِآۓ॥
جلِ جاءُ ایہُ بڈپنا مائِیا لپٹاۓ॥੧॥
پیِسنُ پیِسِ اوڈھِ کامریِ سُکھُ منُ سنّتوکھاۓ॥
ایَسو راجُ ن کِتےَ کاجِ جِتُ نہ ت٘رِپتاۓ॥੨॥
نگن پھِرت رنّگِ ایک کےَ اوہُ سوبھا پاۓ॥
پاٹ پٹنّبر بِرتھِیا جِہ رچِ لوبھاۓ॥੩॥
سبھُ کِچھُ تُم٘ہ٘ہرےَہاتھِپ٘ربھآپِکرےکراۓ॥
ساسِ ساسِ سِمرت رہا نانک دانُ پاۓ॥੪॥੧॥੪੧॥
لفظی معنی:
بھلی ۔ اچھی ۔ سہاوی ۔ سوہنی ۔ کت ہی ۔ کسے ہی ۔ دھولہر۔ محلات ۔ (1) رہاؤ۔ انند۔ خوشی ۔ غریبی ۔ بیکھی ۔ بغیر مال ودولت ۔ سادھ سنگ۔ انکی صحبت جنہوں نے زندگی گذارنے کی رہایں۔ استوار کرلی ہیں۔ ان کے ساتھ ۔۔ جت ۔ جس سے ۔ ہر پربھ چت آئے ۔ خدا کی دل میں یا آئے ۔ وڈپنا۔ عظمت کا وقار۔ مائیا لپتائے ۔ دولت کی محبتمیںملوچ ہونا (1) پیس پیس ۔ آٹا۔ پینا۔ اودھ ۔پہن ۔ کامری ۔ کملی ۔ من سنتوکھائے ۔ دل کو بھر حاصل ہو ۔ راج۔ حکومت۔ کام ۔ کام ۔ ترپسائے ۔ تسلی نہ ہو (2) نگن۔ گنگا۔ رنگ ایک کے ۔ واحد خدا کی محبت میں ۔ سوبھا ۔ شہرت۔ پاٹ۔ ۔ ریشم ۔ پٹنبر۔ ریشمی کیڑے ۔ برتھیا۔ بیفائدہ ۔ رچ لوبھائے ۔ جس سے لالچ میں ملوث ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
وہ گھاس کی چھپر اچھی ہے جس میں الہٰی حمدوثناہ ہوتی ہے ۔ وہ محلات بیکار ہیں جس میں خدا یاد نہیں رہتا خدا کو بھلا دیت ہیں (1) رہاؤ۔نیک پاکدامنوں کی صحبت قربت غریبی اور ناداری کے باوجود اچھی جس میں خدا دل میں یاد آت اہے ۔ یہ یا ایسی عظمت جل کیوں نہ جائے جس کی وجہ انسانی دنیاوی دولت میں مدغم و ملوچ ہوجات اہے (1) چکی پر آتا پینا اور کمبلی پہننا سکون دیتا ہے خوشی ملتی ہے اور دل کو صبر حاصل ہوتا ہے ۔ مگر ایسی حکومت کسی کام نہیں جس میں تسلین حاصل ہ ہو (2) الہٰی محبتمیں تنگے پھرنے والے کو بھی شہرت و عظمت ملتی ہے ۔ ریشمی کپڑے اور پوشاکیں پہنتا بیکار ہے جن کی وجہ سے انسان لالچ میں ملوچ رہتا ہے (3) خدا ہی سب کچھ کرنے اور کرانے والا ہے اور ساری قوتیں اس کے پاس ہیں اننک یہ خیرات مانگتا ہے کہ ہر سانس یاد خدا کو کروں

سوُہیِ مہلا ੫॥
ہرِ کا سنّتُ پران دھن تِس کا پنِہارا ॥
بھائیِ میِت سُت سگل تے جیِء ہوُنّ تے پِیارا ॥੧॥ رہاءُ ॥
کیسا کا کرِ بیِجنا سنّت چئُرُ ڈھُلاۄءُ॥
سیِسُ نِہارءُ چرنھ تلِ دھوُرِ مُکھِ لاۄءُ॥੧॥
مِسٹ بچن بینتیِ کرءُ دیِن کیِ نِیائیِ ॥
تجِ ابھِمانُ سرنھیِ پرءُ ہرِ گُنھ نِدھِ پائیِ ॥੨॥
اۄلوکنپُنہپُنہکرءُجنکادرسارُ॥
انّم٘رِتبچنمنمہِسِنّچءُبنّدءُباربار॥੩॥
چِتۄءُمنِآساکرءُجنکاسنّگُماگءُ॥
نانک کءُ پ٘ربھدئِیا کرِ داس چرنھیِ لاگءُ ॥੪॥੨॥੪੨॥
لفظی معنی:
ہرکاسنت۔ الہٰی روحانی رہبر۔ پران۔ زندگی ۔ دھن۔ سرمایہ۔ پنہارا ۔ پانی ڈہونے والا۔ میت۔ دوست۔ ست۔ بیٹا۔ فرزند ۔ جیئہ ہوں تے ۔ زندگی سے (1) رہاؤ۔ بیجنا۔ پنکھا۔ ڈھلاوؤ۔ چھولاوں۔ سیس نہارؤ۔ سجدہ گروں۔ سرجھکاوں۔ کیسا۔ بالوں ۔ چر تلے ۔ پاؤں کے نچیے (1) مسٹ۔ میٹھے ۔ بچن۔ بول ۔ دین کی نائیاں۔ غریبوں کی مانند۔ تج ابھیمان ۔ گرور اور قار چھوڑ کر (2) اولوکن ۔ دیدار۔ پنہہ۔ پنہہ۔ بار بار۔ درسار۔ دیدار۔ انمرت بچن۔ زندگی کو روحانی بنانے والا کلام ۔ لول۔ سنچو۔ بساؤ۔ ہندؤ۔ بار بار۔ بار برا جھکو سجدہ کرؤ۔ چتوؤ۔ دلمیں خیا ل کرو۔ ساکر و۔ اُمید باندھو ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی عاشق روحانی رہبر کو اپنی زندگی اور سرامیہ اس پریشاور کردوں اور اسکا پانی بھرنے والا بنا رہوں اور اپنے بھائی دوست اور بیٹوں سے بھی پیارا ہے (1) رہاو۔ اپنے بالوں کو پنکھا بنا کر اس روحانی رہبر کو چھور جھلاؤں اور اس سنت کے پاؤں پر سر جھکاؤں سجدہ کرؤں اور دہول پیشانی اور منہ پر لگا وں (1) میٹھی زبان اور بولوں سے ایک غریب کی طرف عرض گذاروں غرور اور وقار چھوڑ کر الہٰی اوساف کے خزانے کے پاؤں پڑوں (2) اس خدمتگار کا بار بار ویدار کرؤں اور اسکے آب حیات زندگی روحانیی واخلاقی بچن وکلام کی اپنے دل میں آبپاشی کروں مراد دلمیں بساوں اور بر بار سجدہ کرؤں (3) اے خدا نانک پر رکم فمرائی کر کر میں تیرے خدمتگار کے پاؤں پڑا رہوں اور دلمیں یہی خیال بسا رہے اور دلمیں یہ امید باندہوں کہ تیرے خدمتگار کا ساتھ بنا رہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
جِنِ موہے ب٘رہمنّڈکھنّڈتاہوُمہِپاءُ॥
راکھِ لیہُ اِہُ بِکھئیِ جیِءُ دیہُ اپُنا ناءُ ॥੧॥ رہاءُ ॥
جا تے ناہیِ کو سُکھیِ تا کےَ پاچھےَ جاءُ ॥
چھوڈِ جاہِ جو سگل کءُ پھِرِ پھِرِ لپٹاءُ ॥੧॥
کرہُ ک٘رِپاکرُنھاپتےتیرےہرِگُنھگاءُ॥
نانک کیِ پ٘ربھبینتیِسادھسنّگِسماءُ॥੨॥੩॥੪੩॥
لفظی معنی:
پر ہمنڈ۔ سارا عالم۔ جہان ۔ کھنڈ۔ ویس ۔ ملک۔ بکھئی ۔ بدکار۔ (1) رہاؤ۔ مکھی ۔ آرام ۔ لپٹاو ۔ اس میں ملوث ہوتے ہو (1) کرنا پتے ۔ رحمان الرحیم ۔ سادھ سنگ۔ راہ راستی کے ساتھ ۔ سماؤ۔ محو رہو۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس دنیاوی دولت نے سارے عالم کو اپنی محبت میں گرفتار کر رکھا ہے اس میں میں بھی لوث ہوں ۔ مجھ بدکار کو بچاؤ اے خدا پانا نام دیکر (1) رہاؤ۔ جس کی وجہ سے کوئی سکھی ہیں میں بھی اسکے پیچھے جارتا ہوں۔ جو سب کو چھوڑ جاتی ہے ۔ اسمیں بار بار لپٹتا ہوں (1) اے رحمان الرحیم کرم فرما و تیری حمدوثناہ کر وں۔ نانک عرض گذارتا ہے کہ میں صحبت و قربت پاکدمناں رہوں۔

راگُ سوُہیِ مہلا ੫ گھرُ ੫ پڑتال
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
پ٘ریِتِپ٘ریِتِ گُریِیا موہن لالنا ॥
جپِ من گوبِنّد ایکےَ اۄرُنہیِکولیکھےَسنّتلاگُمنہِچھاڈُدُبِدھاکیِکُریِیا॥੧॥ رہاءُ ॥
نِرگُن ہریِیا سرگُن دھریِیا انِک کوٹھریِیا بھِنّن بھِنّن بھِنّن بھِن کریِیا ॥
ۄِچِمنکوٹۄریِیا॥
نِج منّدرِ پِریِیا ॥
تہا آند کریِیا ॥
نہ مریِیا نہ جریِیا ॥੧॥
کِرتنِ جُریِیا بہُ بِدھِ پھِریِیا پر کءُ ہِریِیا ॥
بِکھنا گھِریِیا ॥
اب سادھوُ سنّگِ پریِیا ॥
ہرِ دُیارےَ کھریِیا ॥
درسنُ کریِیا ॥
نانک گُر مِریِیا ॥
بہُرِ ن پھِریِیا ॥੨॥੧॥੪੪॥
لفظی معنی:
گریا۔ بلند عطمت ۔ اور ۔ دیگر۔ لیکھے ۔ حساب میں۔ دبھا۔ دوچتی ۔ کریا۔ پگ ڈنڈی (1) رہاؤ۔ نرگن۔ بلا وصف۔ سرگن۔ باوصف۔ انک ۔ بیشمار۔ کو ٹھریا۔ جسم ۔ بھن بھن۔ قسم ۔ قسم ۔ کوتنوریا۔ کوتوال ۔ نج مندر۔ اپنے مندر۔ انند۔ خوشی۔ مریانہ جریا۔ نہموت نہ بڑھاپا (1) گرتن ۔ بناے ہوئے جریا۔ ملوچ۔ بہو بدھ۔ بہت سے طریقوں سے ۔ پھر یا پھرتا ہے ۔ بھٹکتا ہے ۔ پر کو ہریا۔ دوسروں کی تاک میں۔ وکھنا گھر یا ۔ برائیوں میں گرفتار ۔ سادہو سنگ ۔ صحبت پاکدامن پارسا۔ ہر دوآرے ۔ الہٰی بارگاہ ۔ گر مریا۔ ملاپ مرشد ۔ بہد نہ پھر یا۔ دوبارہ بھٹکتا نہیں۔
ترجمہ معہ تشریح:
بلند عظمت محبت دلربا خدا کی ہے اے دل واحد خدا کی ریاض کرو دوسرا کچھ بھی حساب میں اور قبول نہیں ہوتا روحانی رہبر کی صحبت اختیار کر دل سے پس و پیش دوچتی اور ڈگمگانہ چھوڑ دے (1) رہاؤ۔ بیلاگ پاک خدا نے باوصف علام پیدا کرکے بیشمار قسموںکی کوٹھڑیاں مراد جسم بنائے ہیں۔ان میں من کوتوال بنادیا ۔ اسے اپناذاتی گھر بنائیا ہے ۔ اسمیں رہائش کی ہوئی ہے اور وہاں خوشیاں مانتا ہے ۔ نہ اسے موت ہے نہ بڑھاپا (1) انسان اور جاندار خداکی پیدا کی وہئ ی قائنات قدرت میں گھر گیا ہے کئی طرح سے بھٹکتا ہے اور پرائی دولت سرامیہ اور شکل وصورت کی تاک میں رہتا ہے ۔ برائیوں بدکاریوں میں گھرا رہتا ہے اب خودا ریسدہ پاکدامن کی مح﷽ت وقربت اختیا رکہ ہے ۔ یارگاہ الہٰی میں الہٰی دیدار گرتا ہے ۔ اے نانک ملاپ مرشد سے اب بھٹکتا نہیں۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
راسِ منّڈلُ کیِنو آکھارا ॥
سگلو ساجِ رکھِئو پاسارا ॥੧॥ رہاءُ ॥
بہُ بِدھِ روُپ رنّگ آپارا ॥
پیکھےَ کھُسیِ بھوگ نہیِ ہارا ॥
سبھِ رس لیَت بست نِرارا ॥੧॥
برنُ چِہنُ ناہیِ مُکھُ ن ماسارا ॥
کہنُ ن جائیِ کھیلُ تُہارا ॥
نانک رینھ سنّت چرنارا ॥੨॥੨॥੪੫॥
لفظی معنی:
راس۔ ڈرامہ ۔ منڈل۔ ڈرامہ کرنے کے لئے ایک میدان یا اکھاڑ ۔ سٹیج۔ سکاد۔ سارے ۔ساچ ۔ پیدا کرکے ۔ اپاسر۔ پھیلاؤ ۔ ویکھے ۔ دیکھتا ہے ۔ بہو بدھ۔ بہت سے طریقوں سے ۔ روپ رنگ اپارا۔ بیشمار شکلوں صورتوں میں ۔ ہارا۔ ماند نہیں پڑتا ۔ بست نرارا۔ بیلاگ ۔ انوکھا بستا ہے (1) برن ۔ رنگ ۔ چہن ۔ شکل۔ مکھ نہ مسارا۔ نہ منہ نہ داڑھی ۔ رین ۔ دہول ۔ سنت چرنارا۔ روحانی رہبروں کے پاؤں۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا نے یہ عالم اپنے ڈرامے یا کھیل کے لئے ایک سنیما گھر تعمیر کیا ہے (1) رہاؤ۔ بیشمار طریقوں کے ذریعے بیشمار شکلیوں صورتوں اور رنگوں میں ہے ۔ خوشی بھرتے انداز سے اسکا نظارہ کرتا ہے اور کبھی ماندنہیں پڑتا اسکا لطف تو اُٹھاتا ہے مگر خود اس سے لا تعلق اور نرالا انوکھا اوربیلاگ ہے ۔ نہ اسکا کوی رنگ ہے نہ شکل وصورتنہ مونہہ نہ داڑی ۔ اے خدا تیرا یہ کھیل بیان سے باہر ہے ۔ بتائیا نہیں جا سکتا ۔ نانک۔ الہٰی روحانی رہبرورں کے پاوں کی دہول ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
تءُ مےَ آئِیا سرنیِ آئِیا ॥
بھروسےَ آئِیا کِرپا آئِیا ॥
جِءُ بھاۄےَتِءُراکھہُ سُیامیِ مارگُ گُرہِ پٹھائِیا ॥੧॥ رہاءُ ॥
مہا دُترُ مائِیا ॥
جیَسے پۄنُجھُلائِیا॥੧॥
سُنِ سُنِ ہیِ ڈرائِیا ॥
کررو دھ٘رمرائِیا॥੨॥
گ٘رِہانّدھ کوُپائِیا ॥
پاۄکُسگرائِیا॥੩॥
گہیِ اوٹ سادھائِیا ॥
نانک ہرِ دھِیائِیا ॥
اب مےَ پوُرا پائِیا ॥੪॥੩॥੪੬॥
لفظی معنی:
تؤ۔ تیری ۔ سرنی ۔ زیر پشت پناہ ۔ زیر سایہ ۔ جیؤ بھاوے ۔ جیسے تو چاہت اہے ۔ تؤ رکھے سوامی ۔ اے آا بچا۔ مارگ ۔ راستہ ۔ پٹھائیا۔ بھیجا ہے ۔ر ہاؤ۔ دتر۔ دشوار۔ جھلائیا۔ دھکییلنا (1) کرور۔ کرڑا۔ سخت ۔ دھرم رائیا۔ الہٰی منصف (2) گریہہ گھریلو ۔ خانہ داری ۔ اندھ کوپ۔ اندھا گنواں۔ پاوک۔ آگ۔ سگرائیا۔ ساری (3) اوٹ ۔ اسرا ۔ سادھائیا۔ پادکامنراست باز راہ شناش۔ پورا کامل۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تیری پشت پناہی اور زیر سایہتیری کرم وعنیات اور بھروسے سے آئیا ہوں جیسے تو چاہتا ہے تیری رضا ہے میری آقا حفاظت کر مرشد راستے دکھائیا اور بھیجا ہے ۔ رہاؤ۔یہ دنیاوی دولتبھاری دشوار اورنا قابل عبور ہے ۔ جیسے ہو اکے جھوکے (1) میں یہ سن سن کر خوف زدہوہوں کہالہٰی فڑض شناس منصف بھاری سخت مزاج ہے (2) یہ گھر یلوں زندگی خانہ داری اور دنیاوی زندگی آگر بھرا اندھا کنواں ہے (3) اب خدا ریسدہ پاکدامن جنہوں نے روحانی واخلاقی زندگی کی راہوں پر گامزن نہیں ان کا آسرا لے لیا ہے ۔ اے نانک۔ پانا دھیان اور توجہات خدا میں مبذول کر دی ہیں اور کامل خدا کا وصل حاصل ہوگیا ہے ۔

راگُ سوُہیِ مہلا ੫ گھرُ ੬
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
ستِگُر پاسِ بیننّتیِیا مِلےَ نامُ آدھارا ॥
تُٹھا سچا پاتِساہُ تاپُ گئِیا سنّسارا ॥੧॥
بھگتا کیِ ٹیک توُنّ سنّتا کیِ اوٹ توُنّ سچا سِرجنہارا ॥੧॥ رہاءُ ॥
سچُ تیریِ سامگریِ سچُ تیرا دربارا ॥
سچُ تیرے کھاجیِنِیا سچُ تیرا پاسارا ॥੨॥
تیرا روُپُ اگنّمُ ہےَ انوُپُ تیرا درسارا ॥
ہءُ کُربانھیِ تیرِیا سیۄکاجِن٘ہ٘ہہرِنامُپِیارا॥੩॥
سبھے اِچھا پوُریِیا جا پائِیا اگم اپارا ॥
گُرُ نانکُ مِلِیا پارب٘رہمُتیرِیاچرنھاکءُبلِہارا॥੪॥੧॥੪੭॥
راگُ سوُہیِ مہلا ੫ گھرُ ੭
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ॥
تیرا بھانھا توُہےَ منائِہِ جِس نو ہوہِ دئِیالا ॥
سائیِ بھگتِ جو تُدھُ بھاۄےَتوُنّسربجیِیاپ٘رتِپالا॥੧॥
میرے رام راءِ سنّتا ٹیک تُم٘ہ٘ہاریِ॥
جو تُدھُ بھاۄےَسوپرۄانھُمنِتنِتوُہےَادھاریِ॥੧॥ رہاءُ ॥
توُنّ دئِیالُ ک٘رِپالُک٘رِپانِدھِمنساپوُرنھہارا॥
بھگت تیرے سبھِ پ٘رانھپتِپ٘ریِتمتوُنّبھگتنکا پِیارا ॥੨॥
توُ اتھاہُ اپارُ اتِ اوُچا کوئیِ اۄرُن تیریِ بھاتے ॥
اِہ ارداسِ ہماریِ سُیامیِ ۄِسرُناہیِسُکھداتے॥੩॥
دِنُ ریَنھِ ساسِ ساسِ گُنھ گاۄاجےسُیامیِتُدھُبھاۄا॥
نامُ تیرا سُکھُ نانکُ ماگےَ ساہِب تُٹھےَ پاۄا॥੪॥੧॥੪੮॥
لفظی معنی:
بھانا ۔ رضا۔ ساہی ۔ وہی ۔ بھگت۔ پریمی ۔ عاشق۔ دئاکا، نیرباب، تدد بھاوے ۔ جسے تو چاہتاہے ۔ پرتپالا۔ پرورش کرنے والا (1) رام رائے ۔ الہٰی حکمران ۔ ٹیک۔ سہارا ۔ پروان قول۔ ادھاری ۔ آصرا (1) رہاؤ۔ منسا ۔ ارادے ۔ پورنہارا ۔ مکمل کرنے کے توفیق رکھنے والا ۔ کر پاندھ۔ مہربانیوں کا خزانہ ۔پران پت۔ زندگی کے مالک (2) اتھاہ۔ اتنا گہرا ۔ جس کی گنتی نہ ہو سکے حساب نہ کیا جا سکے ۔ اپار ۔ اتنا وسیع جسکا کوئی کنارانہ ۔ ات ۔ نہایت۔ اور ۔ دوسرا ۔ بھائے ۔ تیرے مانند تیرے جیسا ۔ ارادس ۔ عرض گذراش۔ وسرتاہی ۔ بھوے ناہی ۔ سکھداتے ۔ سکھ دینے والا (3) رہن۔ روز وشب ۔ دن رات۔ جے سوامی تدھ۔ اے آقا گر تیری رضا ہو ۔ صاحب ۔ تٹھے ۔ اگر مالک خوش ہو ۔
ترجمہ:
اے میرے خدا وند کریم روحانی رہبروں ولی اللہ کو تیرا ہی آسرا ہے ۔ جیسی تیری رضا ہے وہی قبول ہوتا ہے ۔ ان کے دل و جان کو تیرا ہی اسرا (1) رہاؤ۔ اے خدا جس پر تو مہربان ہوتا ہے اسے اپنی رضامیں رکھتا ہے ۔ تیرا پریمی پیار وہی تو رحمان الرحیم ہے مہربانیوں کا خزانہ ہے ۔ تو دلی ارادے مکمل کرنے والا ہے ۔ اے زندگی کے مالک میرے پیارے سارے بھگت الہٰی عاشق تیرے ہیں اور تو بھگتوں کا پیارا ہے (2) اے خدا تیری گہرائی کا اندازہ نہیں ہو سکتا اتنا گہرا ہے اور اتنا وسیع ہے کہ کنار نہیں اور اتنا بلند ہے کہ دوسرا کوئی تیرے جیسا نہیں اے میراے آقا ( میری) ہماری یہ گذارش سے تجھ سے کہ اے خدا تجھے آرام آسائش مہیا کر نے والے کبھی نہ بھولیں کرنے والے کبھی نہ بھولیں (3) اے خدا اگر تیری رضا ہو اگر تو چاہے تو روز وشب ہر مانس تیری حمدوثناہ کروں اے خدا تیرا نام نانک مانگتا ہے جو سکھ ہے اگر تو کرم عنایت فرمائے تب یہ نعمت حاصل ہو۔۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
ۄِسرہِ ناہیِ جِتُ توُ کبہوُ سو تھانُ تیرا کیہا ॥
آٹھ پہر جِتُ تُدھُ دھِیائیِ نِرمل ہوۄےَدیہا॥੧॥
میرے رام ہءُ سو تھانُ بھالنھ آئِیا ॥
کھوجت کھوجت بھئِیا سادھسنّگُ تِن٘ہ٘ہسرنھائیِپائِیا॥੧॥ رہاءُ ॥
بید پڑے پڑِ ب٘رہمےہارےاِکُتِلُنہیِکیِمتِپائیِ॥
سادھِک سِدھ پھِرہِ بِللاتے تے بھیِ موہے مائیِ ॥੨॥
دس ائُتار راجے ہوءِ ۄرتےمہادیۄائُدھوُتا॥
تِن٘ہ٘ہبھیِانّتُنپائِئوتیرالاءِتھکےبِبھوُتا॥੩॥
سہج سوُکھ آننّد نام رس ہرِ سنّتیِ منّگلُ گائِیا ॥
سپھل درسنُ بھیٹِئو گُر نانک تا منِ تنِ ہرِ ہرِ دھِیائِیا ॥੪॥੨॥੪੯॥
لفظی معنی :
جت۔ جہاں۔ کبہو۔ کبھی ۔ تھان۔ جگہ ۔ مقام۔ کیہا۔ کیسا۔ آٹھ بہر۔ ہر وقت۔ جت تدھ۔ جہاں تجھے ۔ دھیائی۔ دھیان یا توجہ کرؤں۔ نرمل۔ پاک ۔ دیہا۔ جسم (1) بھالن ۔ تلاش کرنے ۔ سادھ سنگ۔ پارساوں کا ساتھ ملاپ ۔ تن سرنائی ۔ ان کے پشت و پناہ (1) رہاؤ۔ تل۔ تھوڑی سی ۔ رتی بھر۔ سادک ۔ راہ راست کے متلاشی ۔ میری ۔ جنہوں نے زندگی کا صراط مستقیم دیافت کر لیا۔ بللاوے ۔ اہ وزاری کرے ۔موہے مائی ۔ انہیں بھی دولت نے اپنی گرفت ۔ چکڑ لیا (2) دس اوتار۔ پیجر ۔ مچھ ۔ کچھ ۔ دراہ۔ نرسنگھ ۔ دامن ۔ ست جگ۔ پرس رام۔ رامچندر۔ کرشن ۔۔ بدھ ۔ کلکی ۔ راجے ۔ حکمران ۔ مہادیو ۔ شو جی ۔ اودہوتا۔ تارک الدنیا۔ بیبھوتا۔ راکھ ۔سیاہ (3) سہج سکھ ۔ ذہنی سکون ۔ آنند۔ خؤشی بھر سکون۔ نام رس۔ نام ۔ سچ وحقیقت کا لطف ۔ منگل۔ خؤشی۔ سپھل درسن ۔ برآدر دیدار۔ بھٹہؤ۔ ملاپ کیا۔ من تن ہر دھیائیا۔ تو دل و جان سے الہٰی حمدثناہ کی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا اس مقام کی تلاش میں آئیا ہوں اور ڈہونڈتے ڈہونڈتے پارساوں کا ساتھ مل گیا (1) رہاؤ۔ اے خدا وہ کونسا مقام ہے جہاں تو کبھی نہ بھولے جہاں ہر وقت تیری یاد میں رہوں جس سے یہ جسم پاک ہوجائے (1) برہما جیسے بیشمار دانشور الہٰی متلاشی وید پڑھ پڑھ کر ماند پڑ گئے مگر ذرا بھی اسکی قدروقیمت نہیں سمجھ کسے ۔ جنہوں نے وسل الہٰی اور صراط مستقیم پالیا ہے جو اسکی تلاش میں گامزن ہیں آہ وزاری کرتے ہیں وہ بھی دنیاوی دولت کی محبت میں گرفتار ہیں (3) دس پیغمبر ہوئے اور شوجی تارک الدنیا ہوا ہے وہ بھی تیرے اوصاف کا آخر اور انجام نہیں پا سکے راکھ بدن پر لگاتے آخر ماند پڑ گئے (3) ذہنی یا روحانی سکون الہٰی نام کا لطف لیا اور الہٰی حمدوثناہ کی اے نانک جس کے دیدار سے زندگی کا مقصد حل ہوجاتا ہے ۔ تب سے دل وجان سے خدا میں اپنا دھیان لگائیا۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
کرم دھرم پاکھنّڈ جو دیِسہِ تِن جمُ جاگاتیِ لوُٹےَ ॥
نِربانھ کیِرتنُ گاۄہُکرتےکانِمکھسِمرتجِتُچھوُٹےَ॥੧॥
سنّتہُ ساگرُ پارِ اُتریِئےَ ॥
جے کو بچنُ کماۄےَسنّتن کا سو گُر پرسادیِ تریِئےَ ॥੧॥ رہاءُ ॥
کوٹِ تیِرتھ مجن اِسنانا اِسُ کلِ مہِ میَلُ بھریِجےَ ॥
سادھسنّگِ جو ہرِ گُنھ گاۄےَسونِرملُکرِلیِجےَ॥੨॥
بید کتیب سِم٘رِتِسبھِساستاِن٘ہ٘ہپڑِیامُکتِنہوئیِ॥
ایکُ اکھرُ جو گُرمُکھِ جاپےَ تِس کیِ نِرمل سوئیِ ॥੩॥
کھت٘ریِب٘راہمنھسوُدۄیَساُپدیسُچہُۄرنا کءُ ساجھا ॥
گُرمُکھِ نامُ جپےَ اُدھرےَ سو کلِ مہِ گھٹِ گھٹِ نانک ماجھا ॥੪॥੩॥੫੦॥
لفظی معنی:
کرم۔ اعمال۔ دھرم۔ انسنای فرائض۔ پاکھنڈ ۔ دکھاوا۔ جم جا گاتی ۔ لوٹے ۔ الہٰی محصولیا لوٹتا ہے ۔ نربان۔ بیلاگ۔ مذہبی فرائض کی ادائیگی پر منحصر نہ ہو۔ کرتن۔ صفت۔ صلاح۔ نمکھ ۔ تھوری سی دیر کے لئے (1) گر پرسادی۔ رحمت مرشد سے بچن کماوئے سنتن کا۔ جو روحانی رہبر کی نصیحت پر عمل کرے (1) رہاؤ۔ کوٹ تیرتھ ۔ کروڑوں زیارت گاہوں ۔ مجن اسنانا۔ خاص موقعہ کا اسنان یا زیارت ۔ کل میہہ۔ اس زمانے میں میل بھریجے ۔ ناپاک ہوجاتا۔ وید کتب ۔ وید اور قربان۔ مکت ۔ نجات ۔ اذادی ۔ ایک اکھر۔ واحد کلام ۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ نرمل سوئی۔ پاک شہرت ۔ ساجھا ۔ مشترکہ ۔ ادھرے ۔ ادھار ہوتا ہے ۔ بچتا ہے ۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں۔
ترجمہ:
اے روحانی رہبرو اگر کوئی روحانی رہبروں کی پندو نصیحت سبق و واعظ پر عمل کرتا ہے وہ اس دنیاوی زندگی کے سمندر (سے) کو کامیابی سے عبور کر لیتا ہے مراد زندگی کامیاب بنا لیتا ہے ۔ رحمت مرشد سے کامیاب ہو جاتا ہے ۔ رہاؤ۔
مذہبی فرائض محض دکھاوا ہے جو ان کو کرتے دکھائی دے رہے ہیں ان کو الہٰی محصولیا لوٹ لیتا ہے مراد زندگی کے لئے اور عاقبت کے لئے فائدہ مند نہیں۔ بغیرکسی خواہش لاگ لپٹ الہٰی حمدوچناہ سے انسانی زندگی بہتر ہوجاتی ہے اور انسان بدیوں سے بچ جاتا ہے (1) کروڑوں تیرتھوں اور خاص خاص مذہبی موقوں کے اشنانوں سے انسان مزید ناپاک ہوجاتا ہے جو انسان نیک انسانوں پارساوںکی صحبت و قربت میں الہٰی حمد وثناہ یا صفت صلاح کرتا ہے ۔ اسکی زندگی پاک و پائش ہو جاتی ہے (2) صرف مذہبی کتابیں ویدوں شاشتروں قران یا بائیل وغیرہ پڑھنے سے ہی ذہی یا روحانی نجات حاسلہیں ہوتی جو انسان ایک لفظ جو مرید مرشد کے مطابق جو کہتا ہے پاک شہرت پاتا ہے (3) یہ واعظ پندو نصٰحت چاروں فرقوں ۔ گھتیر ۔ برہمن ۔ سود۔ ویس کے لئے مشترکہ ہے جو مرید مرشد ہوکر الہٰی نام سچ حق وحقیقت کی ریاضت کرتا ہےد نیا میں برائیوں بدکاریوں سے بچ جاتا ہے ۔ اسے ہر دل میں اے نانک الہٰی دیدار ہوتا ہے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
جو کِچھُ کرےَ سوئیِ پ٘ربھمانہِاوءِرامنامرنّگِراتے॥
تِن٘ہ٘ہکیِسوبھاسبھنیِتھائیِجِن٘ہ٘ہپ٘ربھ کے چرنھ پراتے ॥੧॥
میرے رام ہرِ سنّتا جیۄڈُنکوئیِ॥
بھگتا بنھِ آئیِ پ٘ربھاپنےسِءُجلِتھلِمہیِئلِسوئیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
کوٹِ اپ٘رادھیِسنّتسنّگِاُدھرےَجمُتاکےَنیڑِنآۄےَ॥
جنم جنم کا بِچھُڑِیا ہوۄےَتِن٘ہ٘ہہرِسِءُآنھِمِلاۄےَ॥੨॥
مائِیا موہ بھرمُ بھءُ کاٹےَ سنّت سرنھِ جو آۄےَ॥
جیہا منورتھُ کرِ آرادھے سو سنّتن تے پاۄےَ॥੩॥
جن کیِ مہِما کیتک برنءُ جو پ٘ربھاپنےبھانھے॥
کہُ نانک جِن ستِگُرُ بھیٹِیا سے سبھ تے بھۓنِکانھے॥੪॥੪॥੫੧॥
لفظی معنی:
رام نام رنگ راتے ۔ الہٰی نام میں محو۔ سوبھا ۔ شہرت۔ پراتے ۔ پڑتے (1) ہرسنتا ۔ الہٰی روحانی رہبر۔ جل۔ پانی ۔ تھل۔ ۔زمین ۔مہئیل۔ آسمان ۔ سوئی ۔وہی (1) رہاو۔ کوٹ اپرادھی ۔ کروڑوں گناہگار ۔ سنت سنگ۔ روحانی رہبروں کے ساتھ و صحبت و قربت سے ۔ ادھرے ۔ بچے ۔ جم۔ الہٰی کوتوال۔ یا روحانی موت۔ وچھڑیا۔ جدا ہوا۔ ہوا ۔ (2) مائیا موہ۔ دنیاوی سرمائے کی محبت ۔ بھرم ۔ بھٹکن ۔ تشویش۔ بھؤ۔ خوف۔ سرن ۔ زیہ سایہ۔ منورتھ ۔ مقصد۔ ارادھے ۔ دھیایئے (3) مہما ۔ عطمت وحشمت ۔ کیتک۔ کتنی ۔ ہر نؤ۔ بیان کرؤں۔ بھانے ۔ رضا۔نکانے ۔ بے محتاج ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے خدا عاشقان الہٰی روحانی رہبروں کے برابر کوئی ہستی نہیں ان کی خدا سے گہرا رشتہ اور اشتارکیت بنی رہتی ہے ۔ انہیں پانی زمین وآسمان ہر جگہ بستا دکھائی دیتا ہے ۔ رہاؤ۔ وہ جو کچھ ہو رہا ہے اسے خدا کا کیو اہوا ماننتے ہیں اور الہٰی نام سے متاثر ہوکر اس میں محو ومجذوب رہتے ہیں وجو الہٰی نام سے متاثر ہوکر اسمیں محو ومجذوب رہتے ہیں جو الہٰی پشت پناہ لیتے ہیں ان کی ہر جگہ عظمت و حشمت و شہرت پاتے ہیں۔ (1) ان کی صحبت و قربت سے کروڑوں گناہگار گناہوں سے بچتے ہیں۔ اور روحانی موت ا ن کے نزدیک نہیں پھٹکتی بہت دیر سے خدا سے جن کیجدائی خدا سے ہو سنت ولی اللہ ان کا ملاپ خدا سے کر اد یتے ہیں (2) جو شخس الہٰی پشت روحانی رہبروں کی پشت پناہی اختیار کر لیتا ہے ان کی دنیاوی سرمائے کی محبت و ہم وگمان اور خوف دور کر دیتا ہے جس مدعا و مقصد سے وہ یاد کرتا ویسا وہ ان والی اللہ سے پاتا ہے (3) جو خدا کے پیارے ہو جاتے ہیں جنہیں خدا پیار کرتا ہے ان کی عظمت و حشمت کیا بیان کروں ۔ اے نانک بتادے ۔ جنکا ملاپ سچے مرشد سے ہو گیا سب سے بے محتاج ہوگیا۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
مہا اگنِ تے تُدھُ ہاتھ دے راکھے پۓتیریِسرنھائیِ॥
تیرا مانھُ تانھُ رِد انّترِ ہور دوُجیِ آس چُکائیِ ॥੧॥
میرے رام راءِ تُدھُ چِتِ آئِئےَ اُبرے ॥
تیریِ ٹیک بھرۄاساتُم٘ہ٘ہراجپِنامُتُم٘ہ٘ہارااُدھرے॥੧॥ رہاءُ ॥
انّدھ کوُپ تے کاڈھِ لیِۓتُم٘ہ٘ہآپِبھۓ کِرپالا ॥
سارِ سم٘ہ٘ہالِسربسُکھدیِۓآپِکرےپ٘رتِپالا॥੨॥
آپنھیِ ندرِ کرے پرمیسرُ بنّدھن کاٹِ چھڈاۓ॥
آپنھیِ بھگتِ پ٘ربھِآپِکرائیِآپےسیۄالاۓ॥੩॥
بھرمُ گئِیا بھےَ موہ بِناسے مِٹِیا سگل ۄِسوُرا॥
نانک دئِیا کریِ سُکھداتےَ بھیٹِیا ستِگُرُ پوُرا ॥੪॥੫॥੫੨॥
لفظی معنی:
سہاگن۔ خواہشات کی بھاری آگ۔ تدھ۔ تو ۔ مان۔ وقار۔ تان ۔ طاقت۔ قوت ۔ ردانتر۔ دلمیں۔ چکائی۔ ختم کی (1) چت رہیئے ۔ دل میں بسے ۔ ابھرے ۔ بچین ۔ ٹیک ۔ آسرا۔ بھروسا۔ بھروسا۔ جپ نام۔ نام کی ریاض۔ ادھرے ۔ بدیوں سے بچے ۔ رہاو۔ اندھ کوپ ۔ اندھیرے کوئیں۔ کرپالا۔ مہربان۔ سار۔ خبر گیری ۔ سمال۔ سنبھال۔ پرتپالا۔ پرورش (2) تدر۔ نگاہ شفقت۔ بندھ۔ غلامی ۔ چھڈائے ۔ نجات دلائے (3) بھرم۔ وہم وگمان۔ دسور۔ فکر ۔ تشویش۔
ترجمہ:
اے میرے شہنشاہ خدا اگر تیری یاددل میں بسے اسی میں بچاؤ ہے ۔ تیرا ہی آسرا اور تیرا ہی بھروسا ہے تیرے نام سچ حق وحقیقت کی یادوریاض سے بدیو ں اور براہوں سے بچاؤ ہے (1) رہاؤ۔ اے خدا جنہوں نے تیری پشت پناہی لی انہیں اپنی خاص امداد یعنی خود بچائیا ان خواہشت کی آگ سے دوسری اُمیدیں اور سہارے ختم کرکے ان کے دل میں تیرا ہی وقار اور تیرا ہی آسا اور بھرسا ہے (1) اے خدا تو نے کرم و عنیات فرمائی اور اس دنیاوی اندھے کوئیں سے نکال لیا خود خبر گیری کی سنبھالا تمام آرام و آسائش عنایت کئے اور پرورش کرتا ہے (2) جن پر ہوتی ہے نگاہ شفقت خدا کی انکی غلامی کی کاٹ زنجریں نجات دلاتا ہے اہیں بخشتا ہے خدمت و عبادت اور خود ہی آپ کرتا ہے (3) وہم وگمان مٹا خوف گیا مٹی محبت دنیاوی دولت کی او تامم تشویشات و فکر دور ہوئے ۔ اے نانک کرم فرمائی کی پروردگار ملاپ ہوا کامل مرشد سے ۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
جب کچھُ ن سیِئو تب کِیا کرتا کۄنکرمکرِآئِیا॥
اپنا کھیلُ آپِ کرِ دیکھےَ ٹھاکُرِ رچنُ رچائِیا ॥੧॥
میرے رام راءِ مُجھ تے کچھوُ ن ہوئیِ ॥
آپے کرتا آپِ کراۓسربنِرنّترِسوئیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
گنھتیِ گنھیِ ن چھوُٹےَ کتہوُ کاچیِ دیہ اِیانھیِ ॥
ک٘رِپاکرہُپ٘ربھکرنھیَہارےتیریِبکھسنِرالیِ॥੨॥
جیِء جنّت سبھ تیرے کیِتے گھٹِ گھٹِ تُہیِ دھِیائیِئےَ ॥
تیریِ گتِ مِتِ توُہےَ جانھہِ کُدرتِ کیِم ن پائیِئےَ ॥੩॥
نِرگُنھُ مُگدھُ اجانھُ اگِیانیِ کرم دھرم نہیِ جانھا ॥
دئِیا کرہُ نانکُ گُنھ گاۄےَمِٹھالگےَتیرابھانھا॥੪॥੬॥੫੩॥
لفظی معنی:
جب کچھ نہ سیؤ۔ جب کچھ نہ تھا۔ کون کرم۔ کونسے اعمال ۔ کیا کرتا ۔ تب کیا کرتا تھا۔ آئیا ۔ مراد جنم لیا۔ ٹحاکر۔ آقا۔ خدا۔ رچن رچائیا۔ یہ عالم کی بناوٹ بنائی پیدا کیا (1) مجھ نے کچھو نہ ہوئے ۔ مجھ میں کچھ کرنے کی طاقت نہیں۔ کرتا۔ کرنے والا ، سب نرنتر۔ سب کے اندر۔ سوئی ۔ وہی (1) رہاؤ۔ گنتی گنینہ چھوٹے ۔ حساب کرنے سے نجات نہیں۔ کاچی ۔ خام ۔ ختم ہوجانے والی ۔ ایانی ۔ نادان۔ کرنیہارے ۔ کرنے کی توفیق رکھنے والے ۔ نرالی ۔ انوکھی (2) جیئہ جنت۔ ساری مخلوقات ۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دل میں۔ گت مت۔ روحانی حالت کا اندازہ ۔ قدرت قیم ۔ قائنات کی قدر اور قیمت (3) ہرگن ۔ بے وصف۔ مگدھ ۔ بیوقوف۔ اجان۔ نااہل۔ نادنا۔ اگیانی ۔ بے علم ۔ کرم ۔ دھرم۔ اعمال و فرائض ۔ بھانا۔ رضا۔ فرمان
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے شہنشاہ خدا میرے اندر کوئی طاقت نہیں کہ میں کچھ کر سکوں ۔ خدا ہی کرنے اور کرانے والا ہے سب کے دل میں وہی بستا ہے (1) رہاؤ۔ جب علام وجود میں نہ تھا تو یہ جاندار کیا کرتا تھا اور کن اعمال کی وجہ سے اس ہستی میں آئیا ہے ۔ حقیقت یہ ہے عالم خدانے خود پیداکیا ہے اور اس نے ایک یہ کھیل بنائیا ہے اور خود ہی اسے دیکھ رہا ہے (1) حساب کرنے سے اعداد وشمار گننے سے اس خام مٹ جانے والے جسم کو نجات حاصل نہیں ہو سکتی اے سب کچھ کرنے کی توفیق رکھنے والے تو کرم وعنایت فرما تو انکوھی بخشش کرنے والا ہے (2) یہ ساری مخلوقات تیری پیدا کردہ ہے اور سب کے دل میں تو ہی بستا ہے ۔ سب تجھ میں دھیان لگاتے ہیں۔ اے خدا اپنی عظمت کی تجھ ہی کو خبرہے یہ راز تجھ ہی کو معلوم ہے ۔ تیری قدرت کی قیمت اندازی نہیں ہو سکتی (3) اے خدا میں بے وصف بیوقوف نااہل نادان اور بے علم ہوں اعمال و فرائض سے ناواقف ۔ اے خدا نانک پہ کرم وعنایت فرما مہربانی کرک کہ تیری حمد وثناہ کرتا رہوں اور تیری رضا پیاری رہے راضی رہوں۔
GGS-p 749-750

سوُہیِ مہلا ੫॥
بھاگٹھڑے ہرِ سنّت تُم٘ہ٘ہارےجِن٘ہ٘ہگھرِدھنُہرِناما॥
پرۄانھُ گنھیِ سیئیِ اِہ آۓسپھلتِناکےکاما॥੧॥
میرے رام ہرِ جن کےَ ہءُ بلِ جائیِ ॥
کیسا کا کرِ چۄرُڈھُلاۄاچرنھدھوُڑِمُکھِلائیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
جنم مرنھ دُہہوُ مہِ ناہیِ جن پرئُپکاریِ آۓ॥
جیِء دانُ دے بھگتیِ لائِنِ ہرِ سِءُ لیَنِ مِلاۓ॥੨॥
سچا امرُ سچیِ پاتِساہیِ سچے سیتیِ راتے ॥
سچا سُکھُ سچیِ ۄڈِیائیِجِسکےسےتِنِجاتے॥੩॥
پکھا پھیریِ پانھیِ ڈھوۄاہرِجنکےَپیِسنھُپیِسِکماۄا॥
نانک کیِ پ٘ربھپاسِبیننّتیِتیرےجندیکھنھُپاۄا॥੪॥੭॥੫੪॥
لفظی معنی:
بھاگھٹڑے ۔ خوش قسمت ۔ سنت۔ روحانی رہبر۔ گھر ۔ دلمیں۔ دھن۔ ہرناماما۔ الہٰی نام کی دولت۔ پروان۔ قبول منظور۔ گئی ۔ گنو ۔ سمجھو (1) چرن دہور۔ دہول پاؤں کی (1) رہاؤ۔ ہرجن۔ الہٰی خادم۔ پرا پکاری ۔ دوسروں کا بھلا کرنے والے ۔ جیئہ دان ۔ زندگی کی خیرات۔ ہر سیؤ۔ خدا سے (2) سچا امر۔ سچا حکم۔ پاتساہی ۔ حکمرانی۔ سچے سیتی۔ صدیوی سچ سے ۔ راتے ۔ محو ومجذوب ۔ تن۔ اس سے ۔ جاتے ۔ پہچانے (3) پیسن۔ پیسن کموا۔ آٹا پسنے کی خدمت خرؤں۔ تیرے جن دیکھن پاواں۔ تیرے خادموں کا دیدار کرؤں ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا قربان ہوں تیرے خادموں پر اپنے بالوں کا چور بنا کر ان پر جھلاؤ اور ان کے پاوں کی دہول بطور اداب پیشانی پر لگاوں (1) رہاؤ۔ اے خدا خوش قسمت نہیں تمہارے روحانی رہبر (سنت) جن کے دل میں الہٰی نام سچ حق وحقیقت بستی ہے ۔ ان کا اس عالم میں جنم لینا منظور سمجھو ان کے تام کام برآور ہوتے ہیں۔ (1) وہ لوگوں کی بھلائی کے لئے پیدا ہوتے ہیں انہیں تناسخ نہیں ہوتا وہ لوگوں کو روحانیت اور روحانی زندگی کی نمعت عنایت کرتے ہیں الہٰی پریم میں لگاتے ہیں (2) ان کا فرمان سچا ہوتا ہے اور صدیوی ہوتا ہے سچی حکمرای اور صدیوی اور سچے صدیوی خدا کے پریم پیار میں محو ومجذوب رہتے ہیں ۔ انہیں حقیقی آرام وآسائش اور حقیقی صدیوی عظمت و حشمت ہوتی ہے جس کے وہ خدمتگار ہیں وہی ان کی قدروقیمت سمجھتا ہے (3) نان کی الہٰی حضور میں گذارش ہے کہ ان روحانی رہبر سنتوں کی خدمت پنکھا بلا کر پانی ڈہوکر اور آٹا پیس کر خدت کروںا ور دیدار کرتا رہوں۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
پارب٘رہمپرمیسرستِگُرآپےکرنھیَہارا॥
چرنھ دھوُڑِ تیریِ سیۄکُ ماگےَ تیرے درسن کءُ بلِہارا ॥੧॥
میرے رام راءِ جِءُ راکھہِ تِءُ رہیِئےَ ॥
تُدھُ بھاۄےَتانامُجپاۄہِسُکھُتیرادِتالہیِئےَ॥੧॥ رہاءُ ॥
مُکتِ بھُگتِ جُگتِ تیریِ سیۄاجِسُتوُنّآپِکرائِہِ॥
تہا بیَکُنّٹھُ جہ کیِرتنُ تیرا توُنّ آپے سردھا لائِہِ ॥੨॥
سِمرِ سِمرِ سِمرِ نامُ جیِۄاتنُمنُہوءِنِہالا॥
چرنھ کمل تیرے دھوءِ دھوءِ پیِۄامیرےستِگُردیِندئِیالا॥੩॥
کُربانھُ جائیِ اُسُ ۄیلاسُہاۄیِجِتُتُمرےَ دُیارےَ آئِیا ॥
نانک کءُ پ٘ربھبھۓک٘رِپالاستِگُرُپوُراپائِیا॥੪॥੮॥੫੫॥
لفظی معنی:
پاربرہم۔ کامیاب بنانے والا۔ پر میسور ۔ بھاری حکمران یا آقا ۔ کرنیہار ۔ کرنے کی توفیق رکھنے والا۔ چرن دہوڑ۔ خاک پا۔ (1) تدھ بھاوے ۔ اگر تیری رضا ہو۔ اگر تو چاہے ۔ لیہے بستے ہیں (1) رہاؤ۔ مکت ۔ نجات۔ چھٹکارا۔ آزادی ۔ بھگت ۔ صرف ۔ ہرتنا۔ جگت ۔ طریقہ ۔ سیوا۔ خدمت۔ بیکنٹھ۔ جنت۔ بہشت ۔ کرتن۔ صفت صلاح۔ سردھا۔ بھروسا (2) سمر سمر۔ یاد کرکر ۔ نام جیوا۔ سچ حق وحقیت سے روحانی زندگی ملتی ہے ۔ تن ن دل وجان ۔ نہالا۔ خوشی ہوتی ہے ۔ چرن کمل۔ پھولوں جیسے پاوں ۔ ستگر ۔ سچے مرشد۔ دین دیالا۔ غریب نواز۔ غریب پرور (3) ویلا سہاوی ۔ اچھے موقعہ پر ۔ جت ۔ جس وقت۔ ستگر پورا۔ سچا کامل مرشد۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے میرے شہنشاہ خدا جیسے ہے رضا و فرامن تیرا اسی طرح رہیں۔ اگر چاہیں تو ریاض کریں تیرے نام کی تیرا دیا ہوا آرام و آسائش لیں جیسے بخشش ہو تیری ۔ رہاؤ (1) اے میرے کامیاباں عطا کرنے والے میرے آقا مریے خدا سچے مرشد تو خود ہی سب کچھ کرنے کی توفیق رکھتا ہے تیرا خدمتگار تیرے پاوں کی خاک کی خیرات مانگتا ہے قربان ہے تیرے دیدار پر (1)
اے خدا تیر خدمتگاری ہی زندگی مصارفات اور طرز زندگی اور برائیوں سے نجات کا واحد ذریعہ ہے ۔ مگر کرتا وہی ہے جس سے تو خؤد کراتا ہے دہیں منت و بہشت جہاں عقیدہ تمہہ اور بھروسے سے تیری حمدوثناہ ہوتی ہے (2) الہٰی یادوریاض سے تیرا نام کے دل وجان کو مسرت حاصل ہوتی ہے ۔ اے غریب نواز غریب پرور سچے مرشد تیرے پاک پاؤں دہو وہو کر پیوں (3) قربان ہوں اس خوشنما وقت اور گھڑی پر جن میں تیرے در پر آئیا ہوں جب مہربان ہوا۔ نانک پر تب کامل مرشد سے ملاپ ہوا۔

سوُہیِ مہلا ੫॥
تُدھُ چِتِ آۓمہااننّداجِسُۄِسرہِسومرِجاۓ॥
دئِیالُ ہوۄہِجِسُاوُپرِکرتےسوتُدھُسدادھِیاۓ॥੧॥
میرے ساہِب توُنّ مےَ مانھُ نِمانھیِ ॥
ارداسِ کریِ پ٘ربھاپنےآگےَسُنھِ سُنھِ جیِۄاتیریِبانھیِ॥੧॥ رہاءُ ॥
چرنھ دھوُڑِ تیرے جن کیِ ہوۄاتیرےدرسن کءُ بلِ جائیِ ॥
انّم٘رِتبچنرِدےَاُرِدھاریِتءُکِرپاتےسنّگُپائیِ॥੨॥
انّتر کیِ گتِ تُدھُ پہِ ساریِ تُدھُ جیۄڈُاۄرُ ن کوئیِ ॥
جِس نو لاءِ لیَہِ سو لاگےَ بھگتُ تُہارا سوئیِ ॥੩॥
دُءِ کر جوڑِ ماگءُ اِکُ دانا ساہِبِ تُٹھےَ پاۄا॥
ساسِ ساسِ نانکُ آرادھے آٹھ پہر گُنھ گاۄا॥੪॥੯॥੫੬॥
لفظی معنی:
چت۔ دل ۔ مہاانند۔ بھاری سکون وآرام و آسائش ۔ جس وسرے ۔ جسے بھول جائے ۔ دیال ۔ مہربان۔ تدھ ۔ تجھے ۔ سدادھیائے ۔ہمیشہ دھیان لگاتا ہے (1) نمانی ۔ بے غیرت۔ بے وقار۔ مان ۔ عزت ۔ ارداس ۔ عرض گذارش ۔ جیوا۔ نزدہ ہوں۔ بانی ۔ کلام (1) رہاؤ۔ چرن دہوڑ۔ خاک پا۔ درسن ۔ دیدار ۔ بل جائی ۔ قرربان ۔ انمرت بچن ۔ دلمیں بسانا۔ سنگ ۔ ساتھ ۔قربت (2) انتر کی گت۔ اندروی حالت۔ بھگت۔ عبادت و خدمت ۔ سوئی۔ وہی (3) کر ۔ ہاتھ ۔ دانا۔ خیرات۔ صاحب تٹھے ۔ مہربان ہوئے مالک۔ آرادھے ۔ یادوریاض ۔ آٹھ پہر۔ ہر وقت۔
ترجمہ معہ تشریح:
میری تیرے پاس عرض و گذارش ہے تیرا کلام سن سن کر مجھے روحانی زندگی حاصل ہوتی ہے (1) رہاؤ۔ اے خدا جب تو دل میں بستا ہے تو بھاری سکون اور خوشی محسوس ہوتی ہے جسے بھول جانا ہے اس کی روحانی واخلاقی موت ہوجاتی ہے ۔ جس پر تو کرم فرمائی کرتا اورمہربان ہوتا ہے وہ ہمیشہ تجھ میں دھیان لگات اہے (1) اے خدا تیرے خدتمگتاروں اور پریمیوں کے پاؤں کی دہول بن جاؤں اور دیدار پر قربان جاوں اور آب حیات کلما جس سے زندگی روحانی اخلاقی بن جاتی ہے ۔ دل میں بستا ہے تب تیری کرم وعنایت سے تو تیرا ساتھ و صحبت و قربت حاصل ہوتی ہے (2) اے خدا میری اندرونی حالت تجھ پر افشاں ہے ۔ تیرے برابرکوئی دوسری ہستی نہیں۔ اے جسے تو راغب کرتا ہے ۔ اسے رغبت ہوتی ہے وہی تمہارا پیارا بھگت ارو پریمی ہے (3) دونوں ہاتھ باندھ کر دست بستہ ایک خیرات مانگتا ہوں جو تیری کرم فرمائی اور خوشنودی سے ملتی ہے ۔ اے نانک۔ ہر سانس ہر وقت تیری حمدوثناہ کروں۔