Urdu-Master-10

SGGS p. 270 -298
جِہ پ٘رسادِ توُنّ پ٘رگٹُ سنّسارِ ॥
تِسُ پ٘ربھ کءُ موُلِ ن منہُ بِسارِ ॥
جِہ پ٘رسادِ تیرا پرتاپُ ॥
رے من موُڑ توُ تا کءُ جاپُ ॥
جِہ پ٘رسادِ تیرے کارج پوُرے ॥
تِسہِ جانُ من سدا ہجوُرے ॥
جِہ پ٘رسادِ توُنّ پاۄہِ ساچُ ॥
رے من میرے توُنّ تا سِءُ راچُ ॥
جِہ پ٘رسادِ سبھ کیِ گتِ ہوءِ ॥
نانک جاپُ جپےَ جپُ سوءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
پ٘رگٹُ۔ با شہرت۔ مشہور۔ سنسار۔ عالم ۔ دنیا۔ مول۔ بالکل۔ پرتاپ ۔ وقار۔ عزت۔ موڑھ ۔ مورکھ ۔ جاہل۔ کارج ۔ کام ۔ حضورے ۔ حاضر۔ راچ ۔ گھل مل۔ سوئے ۔ اسے ہی
ترجمہ:
جس داتا کی رحمت سے تو عالم میں شہرت پاتا ہے ایسے خدا کو دل سے بالکل نہ بھلا ۔ جس کی رحمت سے وقار ہے قائم تیرا عزت اور شوکت قائم ہے ۔ اے جاہل من اس کو یاد کر یاد میں عزت مخفی ہے جس داتا کی رحمت سارے کام مکمل ہوجاتے ہیں اے دل جان لے وہ ہر دم تیرا ساتھی ہے جس پاک خدا کی برکت سے تو سچ سچائی پاتا ہے ۔ اے دل اس پاک خدا سے اپنا تو رشتہ بنا ۔ جس پاک خدا کی رحمت سے زندگی کامیاب ہوجاتی ہے ۔ اے نانک جس کی رحمت سے انسان رسائی پاتا ہے وہ ریاض الہٰی کرتا ہے ۔

آپِ جپاۓ جپےَ سو ناءُ ॥
آپِ گاۄاۓ سُ ہرِ گُن گاءُ ॥
پ٘ربھ کِرپا تے ہوءِ پ٘رگاسُ ॥
پ٘ربھوُ دئِیا تے کمل بِگاسُ ॥
پ٘ربھ سُپ٘رسنّن بسےَ منِ سوءِ ॥
پ٘ربھ دئِیا تے متِ اوُتم ہوءِ ॥
سرب نِدھان پ٘ربھ تیریِ مئِیا ॥
آپہُ کچھوُ ن کِنہوُ لئِیا ॥
جِتُ جِتُ لاۄہُ تِتُ لگہِ ہرِ ناتھ ॥
نانک اِن کےَ کچھوُ ن ہاتھ ॥੮॥੬॥
لفظی معنی:
گاوائے ۔ جو جنہیں خود گاوائے ۔ پر گاس۔ روشنی ۔ کمل و گاس۔ دل خوش ہوتا ہے ۔ سو پرسنن ۔ اس کی خوشی پر ۔ سوئے ۔ وہ ۔ دیا۔ مہربانی ۔ مت۔ عقل ۔ ہوش ۔ اتم ۔ بلند رتبہ ۔ سرب ندھان۔ سارے خزانے ۔ مئیا ۔ کرم و عنایت ۔ بخشش ۔ اپہو۔ از خود ۔کنہو۔ کسی نے ۔ ہر ناتھ ۔ مالک خدا۔ کچھ نہ ہاتھ ۔ زیر اختیارات توفیق ۔
ترجمہ:
توفیق جسے رب دیتا ہے وہی نام خدا کا لیتا ہے ۔ جس پر خود رب رحمت کرتا ہے وہی حمد خدا کی کرتا ہے ۔ جس پر خدا کرم وعنایت کرتا ہے وہی علم کی روشنی پاتا ہے ۔ شفقت و رحمت سے اس کی دل کا کونل کھل جاتا ہے ۔ جس انسان پر خدا خوش ہوتا ہے ۔ اس کے دلمیں بستا ہے ۔ جس پر رحمت کی بارش کرتا ہے وہ انسان عاقل ہو جاتا ہے ۔ اے خدا تیری نظر عنایت سارے مال خزانے ہیں۔ جب تک تیری ہو نہ عنایت کون جہانمین کچھ پاتا ہے ۔ جہا ں جہاں ۔ جس جس کام لگاتا ہے ۔ تو انسان وہاں لگ جاتا ہے ۔ اے نانک۔ انسان کے کچھ ہاتھ نہیں قوت خدا میں ساری ہے ۔

سلوکُ ॥
اگم اگادھِ پارب٘رہمُ سوءِ ॥
جو جو کہےَ سُ مُکتا ہوءِ ॥
سُنِ میِتا نانکُ بِنۄنّتا ॥
سادھ جنا کیِ اچرج کتھا ॥੧॥
لفظی معنی:
اگم۔ انسانی رسائی سے بلند۔ اگادھ ۔ لا محدود ۔ پار برہم۔ کامیابیاں عطا کرنے والا۔ سوئے ۔ وہی ۔ میتا ۔ دوست ۔ بنونتا۔ عرض گذارتا ہے ۔ اچرج ۔ چران کن ۔ کتھا ۔ کہانی (1)
ترجمہ:
خدا لا محدود ہے انسانی رسائی سے بلند ہے ۔ وہی کا میابیاں عنایت کرنے والا ہے ۔ نانک عرض گذارتا ہے ۔ پاکدامن خدا رسیدہ انسانوں کی عجیب و غریب حیران کن کہانی ہے ۔

اسٹپدیِ ॥
سادھ کےَ سنّگِ مُکھ اوُجل ہوت ॥
سادھسنّگِ ملُ سگلیِ کھوت ॥
سادھ کےَ سنّگِ مِٹےَ ابھِمانُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ پ٘رگٹےَ سُگِیانُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ بُجھےَ پ٘ربھُ نیرا ॥
سادھسنّگِ سبھُ ہوت نِبیرا ॥
سادھ کےَ سنّگِ پاۓ نام رتنُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ ایک اوُپرِ جتنُ ॥
سادھ کیِ مہِما برنےَ کئُنُ پ٘رانیِ ॥
نانک سادھ کیِ سوبھا پ٘ربھ ماہِ سمانیِ ॥੧॥
لفظی معنی و ترجمہ:
پاکدامن کی صحبت سے سرخرو ہوجاتا ہے انسان ۔ پاکدامن کی صحبت سے دکاروں اور بدکاریوں کی دور پلیدی ہو جاتی ہے پاکدامن کی صحبت سے غرور تکبر مٹتا ہے ۔ پاکدامن کی محبت سے قربت الہٰی ملتی ہے اور سمجھ قربت کی آتی ہے ۔ برائیوں اور گناہوں کا خاتمہ ہوجاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے سچ اور نام الہٰی جو ہیرے کی مانند ہے ۔ انسان ہمیشہ پاتا ہے ۔ پاکدامن کی عظمت اور حشمت کون بیان کر سکتا ہے ۔ اے نانک جو کرتا ہے حمدخدا کی پاکدامن کی تعریف بھی کرتا ہے ۔

سادھ کےَ سنّگِ اگوچرُ مِلےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ سدا پرپھُلےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ آۄہِ بسِ پنّچا ॥
سادھسنّگِ انّم٘رِت رسُ بھُنّچا ॥
سادھسنّگِ ہوءِ سبھ کیِ رین ॥
سادھ کےَ سنّگِ منوہر بیَن ॥
سادھ کےَ سنّگِ ن کتہوُنّ دھاۄےَ ॥
سادھسنّگِ استھِتِ منُ پاۄےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ مائِیا تے بھِنّن ॥
سادھسنّگِ نانک پ٘ربھ سُپ٘رسنّن ॥੨॥
لفظی معنی:
اگوچر۔ اعضائے علم جسمانی ۔ اعضائے جسمانی کی رسائی سے اوپر۔ پر پھلے ۔ خوشباش۔ پنچا۔ پانچوں احساسات بد۔ کام ۔ کرودھ ۔ شہوت ۔ غصہ ۔ محبت ۔ لالچ اور تکبر ۔ جذبات برائیاں۔ انمرت رس۔ آبحیات کا لطف۔ بھنچا ۔ دھاوے ۔ بھٹکتا ہے ۔ استھت ۔ تحمل مزاج ۔ مستقل مزاج ۔ بھن ۔ خدا ۔ بیلاگ۔ بیداغ۔ سوپر سین ۔ خوش ۔
ترجمہ:
پاکدامن کی صحبت میں نا قابل بیان خدا مل جاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت میں دل باغ باغ ہو جاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے پانچوں بد جذبات قابو ہوجاتے ہیں۔ سادہو کی صحبت ہے آبحیات اسکا لطف اٹھاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے انسان سب کی دہول ہوجاتا ہے ۔ سادہو کی صحبت سے انسان کا کلام پاک کلام ہوجاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے انسان تحمل مزاج ہوجاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے انسان سکون پاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے دنیاوی دولت کے تاثر سے بیداغ ہو جاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے نانک خدا مہربان ہوجاتا ہے ۔

سادھسنّگِ دُسمن سبھِ میِت ॥
سادھوُ کےَ سنّگِ مہا پُنیِت ॥
سادھسنّگِ کِس سِءُ نہیِ بیَرُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ ن بیِگا پیَرُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ ناہیِ کو منّدا ॥
سادھسنّگِ جانے پرماننّدا ॥
سادھ کےَ سنّگِ ناہیِ ہءُ تاپُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ تجےَ سبھُ آپُ ॥
آپے جانےَ سادھ بڈائیِ ॥
نانک سادھ پ٘ربھوُ بنِ آئیِ ॥੩॥
لفظی معنی:
میت۔ درست ۔ پنت ۔ پاک ۔ ویر ۔ دشمنی ۔ بیگا۔ ٹیڑھا ۔ پر مانند۔ پرم ۔ اونچا۔ انند۔ آرام۔ پر مانند۔ آرام و آسائش کا ملاک۔ خدا۔ ہوء تاپ ۔ خودی کا غرور ۔ علیحدگی کا خیال۔ آپ ۔ خوئش پن۔ سادھ و ڈائی ۔ پاکدامنی کی عظمت ۔ بن آئی ۔ آپسی میل ملاپ ۔
ترجمہ:
صحبت پاکدامن سے دشمن دوست ہوجاتا ہے پاکدامن کی صحبت سے انسان پاکدامن ہو جاتا ہے صحبت پاکدامن کی صحبت سے برائی کی طرف قدم نہیں جاتے صحبت سے پاکدامن کی برا نہ کسی کو سمجھیگا ۔ صحبت سے پاکدامن کی تو ابدی راحت پائیگا۔ صحبت سے پاکدامن کی تپش خودی کی مٹ جائیگی ۔ صحبت سے پاکدامن کی خودی ختم ہوجاتی ہے ۔ خدا کو ہی معلوم ہے عظمت پاکدامن کی اے نانک۔ خدا اور پاکدامن کا آپس میں ہے پختہ پیار۔

سادھ کےَ سنّگِ ن کبہوُ دھاۄےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ سدا سُکھُ پاۄےَ ॥
سادھسنّگِ بستُ اگوچر لہےَ ॥
سادھوُ کےَ سنّگِ اجرُ سہےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ بسےَ تھانِ اوُچےَ ॥
سادھوُ کےَ سنّگِ مہلِ پہوُچےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ د٘رِڑےَ سبھِ دھرم ॥
سادھ کےَ سنّگِ کیۄل پارب٘رہم ॥
سادھ کےَ سنّگِ پاۓ نام نِدھان ॥
نانک سادھوُ کےَ کُربان ॥੪॥
لفظی معنی:
کبہو ۔ کبھی بھی ۔ دھاوے ۔ دور دہوپ ۔ بھٹکن ۔ دست ۔ اشیا۔ اگوچر۔ نا قابل بیان ۔ لہے ۔ ملتی ہے ۔ اجر ۔ نا قابل برداشت۔ تھان اوپے ۔ بلند رتبہ ۔ بلند مقام ۔ محل پہوپے ۔ الہٰی مندر تک رسائی ۔ درڑے ۔پختہ ۔ سمجھ پاتا ہے ۔ دھرم ۔ فرائض انسانی ۔ کیول۔ صرف۔ پار برہم۔ پار لگانے والا۔ خدا۔ نام ۔ سچ ۔ حق و حقیقت۔ ندھان۔ خزانہ ۔ نام ندھان۔ سچ کا خزانہ ۔ قربان ۔ صدقہ ۔
ترجمہ:
صحبت سے پاکدامن کی دل کی بھٹکن جائیگی ۔ صحبت سے پاکدامن کی آسائش ہمیشہ ملتی ہے ۔ آئیگی صحبت سے پاکدامن کی اشیا انوکھی پاتا ہے صحبت سے پاکدامن نا قابل برداشت برداشت گر جاتا ہے ۔ صحبت سے پاکدامن کی اعلے منزل پائیگا۔ صحبت سے پاکدامن کی خانہ خدا تو پائیا۔ صحبت سے پاکدامن کی شناخت ہوجاتی ہے ۔ انسانی ایمانوں صحبت سے پاکدامن کی سچ اور نام الہٰی کا خزانہ ملتا ہے ۔ نانک قربان ہوں ایسے پاکدامنوں پر۔

سادھ کےَ سنّگِ سبھ کُل اُدھارےَ ॥
سادھسنّگِ ساجن میِت کُٹنّب نِستارےَ ॥
سادھوُ کےَ سنّگِ سو دھنُ پاۄےَ ॥
جِسُ دھن تے سبھُ کو ۄرساۄےَ ॥
سادھسنّگِ دھرم راءِ کرے سیۄا ॥
سادھ کےَ سنّگِ سوبھا سُردیۄا ॥
سادھوُ کےَ سنّگِ پاپ پلائِن ॥
سادھسنّگِ انّم٘رِت گُن گائِن ॥
سادھ کےَ سنّگِ س٘رب تھان گنّمِ ॥
نانک سادھ کےَ سنّگِ سپھل جننّم ॥੫॥
لفظی معنی:
سادھ کی صحبت کرنے سے سارا خاندان بچ جاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت کرنے سے دوست گرض یہ کہ سارا قبیلہ بچ جاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے آپسی دولت ملتی ہے ۔ جس دولت کی برکت سے دہگیر بھی فیض پاتے ہیں۔ پاکدامن کی صحبت سے بھی فیض پاتے ہیں ۔ پاکدامن کی صحبت سے منصف الہٰی خدمت کرتا ہے اور فرشتے بھی نیکی کی شہرت کرتے ہیں۔ پاکدامن کی صحبت سے سارے گناہ ختم ہوجاتے ہیں۔ پاکدامن کی صحبت سے اوصاف آب حیات کے سے اوصاف کا گائن کرتے ہیں۔ پاکدامن کی صحبت سے ہر جا رسائی پاتے ہیں۔ اے نانک پاکدامن کی صحبت سے زندگی کامیاب ہوجاتی ہے ۔

سادھ کےَ سنّگِ نہیِ کچھُ گھال ॥
درسنُ بھیٹت ہوت نِہال ॥
سادھ کےَ سنّگِ کلوُکھت ہرےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ نرک پرہرےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ ایِہا اوُہا سُہیلا ॥
سادھسنّگِ بِچھُرت ہرِ میلا ॥
جو اِچھےَ سوئیِ پھلُ پاۄےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ ن بِرتھا جاۄےَ ॥
پارب٘رہمُ سادھ رِد بسےَ ॥
نانک اُدھرےَ سادھ سُنِ رسےَ ॥੬॥
لفظی معنی:
گھال۔ محبت و مشقت ۔ درشن۔ دیدار ۔ نہال۔ خوش ۔ کللو کھت۔ گناہ ۔ وکار۔ بدکاریاں۔ ترک ۔ دوزخ۔ اینہاں۔ یہاں۔ اوہاں۔ وہاں۔ ہر دو عالم میں۔ سہیلا۔ آسان ۔ آسائش ۔ آرام دیہہ ۔ و چھرت ۔ جدائی پائے ہوئے ۔ اچھے ۔ خواہش ۔ چاہ۔ برتھا۔ بیکار۔ ردھ ۔ دل ۔ سادھ رسے ۔ پاکدامن کی زمان سے ۔
ترجمہ:
پاکدامن کی صحبت میں رہنے سے حصول کے لئے نہیں ضرورت مشقت کرنے کی ۔ دیدار سے دل کا گنول کھل جاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت کرنے سے بیداغ انسان ہوجاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے دوزخ سے انسان نجات پاجاتا ہے پاکدامن کی صحبت سے جدا ہوئے مل جاتے ہیں۔ اور حسب خواہش پھل پاتے ہیں۔ پاکدامن کی صحبت سےا نسان نہ خالی جائیگا ۔ خدا خود پاکدامن کے دلمیں بستا ہے ۔ اے نانک پاکدامن کی زبان سے سنکر بیکاروںس ے بدکاروں سے بچ جاتا ہے ۔

سادھ کےَ سنّگِ سُنءُ ہرِ ناءُ ॥
سادھسنّگِ ہرِ کے گُن گاءُ ॥
سادھ کےَ سنّگِ ن من تے بِسرےَ ॥
سادھسنّگِ سرپر نِسترےَ ॥
سادھ کےَ سنّگِ لگےَ پ٘ربھُ میِٹھا ॥
سادھوُ کےَ سنّگِ گھٹِ گھٹِ ڈیِٹھا ॥
سادھسنّگِ بھۓ آگِیاکاریِ ॥
سادھسنّگِ گتِ بھئیِ ہماریِ ॥
سادھ کےَ سنّگِ مِٹے سبھِ روگ ॥
نانک سادھ بھیٹے سنّجوگ ॥੭॥
لفطی معنی:
سرپر ۔ ضرور۔ میٹھا ۔ پیارا۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں ۔ آگیا کاری ۔ فرمانبردار ۔ گت۔ اچھی حالت۔ روگ ۔ بیماری ۔ بھیٹے ۔ ملاپ ۔ سنجوگ۔ ملاب ۔ خوش قسمتی سے ۔
ترجمہ:
پاکدامن کی صحبت میں نام خدا کا سن پاؤگے ۔ پاکدامن کی صحبت میں حمد الہٰی گآو گے ۔ پاکدامن کی صحبت سے بدیوں سے بچاو ہاجتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے خدا سے پیار ہوجاتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے ہر دلمیں نور الہٰی کا دیدار ہوتا ہے ۔ پاکدامن کی صحبت فرمانبردار الہٰی ہوجاتے ہیں۔ پاکدامن کی صحبت سے اخلاقی و روحانی حالت سنور جاتی ہے ۔ پاکدامن کی صحبت سے سب بیماریاں ختم ہوجاتی ہے ۔ اے نانک انسان کو خوش قسمت سے صحبت و قربت حاصل ہوتی ہے ۔

سادھ کیِ مہِما بید ن جانہِ ॥
جیتا سُنہِ تیتا بکھِیانہِ ॥
سادھ کیِ اُپما تِہُ گُنھ تے دوُرِ ॥
سادھ کیِ اُپما رہیِ بھرپوُرِ ॥
سادھ کیِ سوبھا کا ناہیِ انّت ॥
سادھ کیِ سوبھا سدا بیئنّت ॥
سادھ کیِ سوبھا اوُچ تے اوُچیِ ॥
سادھ کیِ سوبھا موُچ تے موُچیِ ॥
سادھ کیِ سوبھا سادھ بنِ آئیِ ॥
نانک سادھ پ٘ربھ بھیدُ ن بھائیِ ॥੮॥੭॥
لفظی معنی:
مہما۔ عظمت۔ جیتا ۔ جتنا۔ سیتا ۔ اتنا ۔ دکھیائے ۔ بیان کرتے ہیں۔ اپما۔ عظمت۔ مشہوری ۔ ترعیف۔ تیہہ گن تینوں اوصافوں سے ۔ رہی ۔ بھر پور ۔ پوری ہرجا۔ سوبھا۔ نیک شہرت۔ بے انت۔ بیشمار۔ اوچ تے اوچی ۔ بلند سے بلند ۔ موچ تے موچی ۔ زیادہ سے زیادہ ۔ بن آئی ۔ موزوں ہے ۔ مناسب ہے ۔ ساد ۔ پربھ ۔ بھید نہ بھائی۔ پاکدامن انسان اور خدا کے درمیان کوئی راز نہیں۔
ترجمہ:
پاکدامن کی عظمت ویدوں کو معلوم کہاں۔ جتنا جتنا سنتے ہیں اتنا اتنا کرتے ہیں بیان۔ سادھ کی عظمت دنیاوی تینوں اوصافؤں سے ہے کہیں دور۔ عطمت اور شان و شوکت پاکدامن کی عالم میں سارے ہے ۔نیک شہرت پاکدامن کی کچھ شمار نہیں کچھ انت نہیں۔ شہرت پاکدامن کی کا شمار نہیں اور ہے ہمیشہ ۔ شان اور عظمت پاکدامنوں کی اونچی سے بھی اونچی ہے شان پاکدامنوں کی اعلے سے بھی اعلے ہے ۔ ایسی نیک شہرت پاکدامن کے لئے ہی موزوں اور مناسب ہے ۔ اے نانک۔ پاکدامن انسان اور خدا میں کوئی راز نہ رائی ہے ۔

سلوکُ ॥
منِ ساچا مُکھِ ساچا سوءِ ॥
اۄرُ ن پیکھےَ ایکسُ بِنُ کوءِ ॥
نانک اِہ لچھنھ ب٘رہم گِیانیِ ہوءِ ॥੧॥
لفظی معنی:
من ساچا ۔ پاک دل ۔ سکہہ ساچا۔ پاک زباں۔سوئے ۔ جسکا۔ اور ۔ دگر۔ دیگر ۔ دوسرا۔ پیکہے ۔ دیکھے ۔ سمجھے ۔ ایکس۔ واحد۔ بن ۔ بغر ۔ کوئے کسی کو ۔ لچھں۔ وصف۔ صفت۔ برہم۔ خدا۔ اللہ تعالیٰ ۔ گیانی ۔ عالم ۔ جاننے والا ۔
ترجمہ:
پاک من ہو جاسکا اور زبان بھی پاک ہو چکی واحد خدا اور سب میں نور خدا کا دیکھے وہ نہ غیر سے اسکا تعلق ہو ۔ اے نانک۔ یہ اوصاف ہو جس میں وہ برہم گیانی یعنی عارف کہلائیگا۔

اسٹپدیِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ سدا نِرلیپ ॥
جیَسے جل مہِ کمل الیپ ॥
ب٘رہم گِیانیِ سدا نِردوکھ ॥
جیَسے سوُرُ سرب کءُ سوکھ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ د٘رِسٹِ سمانِ ॥
جیَسے راج رنّک کءُ لاگےَ تُلِ پۄان ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ دھیِرجُ ایک ॥
جِءُ بسُدھا کوئوُ کھودےَ کوئوُ چنّدن لیپ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا اِہےَ گُناءُ ॥
نانک جِءُ پاۄک کا سہج سُبھاءُ ॥੧॥
لفظی معنی:
نرلیپ ۔ بلا تاثر۔ بیلاگ۔ بیداغ۔ الیپ ۔ پاک ۔ نردوکہہ۔ بیگانہ ۔ سور۔ سورج ۔ سرب کو سوکہہ۔ سب کو سکھاتا ہے ۔ درشٹ۔ نظریہ ۔ سمان۔ یکساں۔ برابر۔ راج ۔ حکمران۔ رنک۔ غریب۔ کنگال۔ نردھن۔ تل۔ برابر۔ پوان۔ ہوا۔ دھیرج۔ تحمل۔ بسد۔ زمین۔ کوؤ۔ کوئی ۔ چندن۔ خوشبودار لکڑی ۔ لیپ ۔ ملتا ۔ مالش ۔ گناؤ۔ وصف۔ پاوک ۔ آگ۔ سہج ۔ قدرتی ۔ پر سکون ۔ سبھاؤ۔ عادت ۔ کردار۔
ترجمہ:
جو الہٰی علم سے واقف ہے پاک ہے وہ بیداغ ہے وہ جیسے کیچڑ میں ہونے پر بھی کونل بیداغ ہوتا ہے ۔ خدا کو جاننے اور پہچاننے والا دائم ہی بیداغ ہوجاتا ہے ۔جیسے سورج سدکہہ سکہا کر سب کو پاک بناتا ہے ۔ خدا کو جاننے اور پہچاننے والے کا نظریہ یہ سب کے لئے برابر ہے ۔ حکمران اور غریب کو ہوا برابر سب کو لگتی ہے ۔ خدا کو جاننے والے کے دلمیں صبر اور تحمل رہتا ہے ۔ جیسے ایک زمین کھودتا ہے اور ایک چندن کا لیپ کرتا ہے جس کے دلمیں علم خدا کا اسکو یہی وصف ہے جیسے اے نانک آگ ہے قدر تی وصف ہے ۔ کہ سب کو برابر جلاتی ہے ۔ ایسے ہی برہم گیانی کا یہی وصف و فطرت ہے ۔ اس کی پاک انسان ہے وہ ۔

ب٘رہم گِیانیِ نِرمل تے نِرملا ॥
جیَسے میَلُ ن لاگےَ جلا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ منِ ہوءِ پ٘رگاسُ ॥
جیَسے دھر اوُپرِ آکاسُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ مِت٘ر ست٘رُ سمانِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ ناہیِ ابھِمان ॥
ب٘رہم گِیانیِ اوُچ تے اوُچا ॥
منِ اپنےَ ہےَ سبھ تے نیِچا ॥
ب٘رہم گِیانیِ سے جن بھۓ ॥
نانک جِن پ٘ربھُ آپِ کرےءِ ॥੨॥
لفظی معنی:
نرمل نے نرملا۔ ناہیت پاک۔ پر گاس۔ نورنای ۔ روشن۔ دھر ۔ دھرتی۔ زمین۔ متر ۔ ستر۔ دوست اور دشمن۔ سمان۔ برابر ۔ ابھیمان۔ تکبر ۔ غرور۔
ترجمہ:
خدا کو جاننے والا پاکیزہ ہستی ہوتا ہے ۔ جیسے پاک ہوتا ہے پانی ایسے ہی وہ پاک ہوتا ہے خدا کو جاننے والوں کا دل ہمیشہ نوری ہوتا ہے ۔ جیسے آسمان کے نور سے دھرتی روشن رہتے ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا کا اسکو دوست دشمن برابر ہوتے ہیں۔ جس کے دلمیں علم خدا کا تکبر اور خودی سے ان کی دوری رہتی ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا کا وہ اونچوں سے بھی اونچا ہے دلمیں اس کے عاجزی اور مسکینی ہر دم بستی ہے ۔ علم کا خدا کا اسی کو ہوگا جسے خود خدا علام سے بناتا ہے ۔ اے نانک یہ علم اسی کو ہوگا جس کو خڈا خود علم سکھاتا ہے ۔

ب٘رہم گِیانیِ سگل کیِ ریِنا ॥
آتم رسُ ب٘رہم گِیانیِ چیِنا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کیِ سبھ اوُپرِ مئِیا ॥
ب٘رہم گِیانیِ تے کچھُ بُرا ن بھئِیا ॥
ب٘رہم گِیانیِ سدا سمدرسیِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کیِ د٘رِسٹِ انّم٘رِتُ برسیِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ بنّدھن تے مُکتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کیِ نِرمل جُگتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا بھوجنُ گِیان ॥
نانک ب٘رہم گِیانیِ کا ب٘رہم دھِیانُ ॥੩॥
لفظی معنی:
رینا۔ دہول۔ آتم رس۔ روحانی لطف۔ اخلاقی مزہ ۔ چینا۔ سمجھا۔ پہچان کی ۔ میا۔ مہربانی ۔ بھیا۔ ہوتا۔ سمدرسی ۔ مساوی ۔ نظریہ ۔ برہم گیانی کی درسٹ انمرت برسی۔ خدا کو جاننے والے کا نظریہ آب حیات کی بارش کرتا ہے ۔ بندھن۔ بندش ۔ غلامی ۔ مکتا۔ نجات یافتہ ۔ آزاد۔ جگتا ۔ طریقہ ۔ بھوجن۔ کھانا۔ دھیان۔ توجہ ۔
ترجمہ:
خدا کو جاننے والا سب سے عاجزی و انکساری سے پیش آتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم ہے وہ روحانی اخلاقی لطف اٹھاتا ہے ۔ جس کے دلمین ہے علم خدا کا وہ سب سے شفقت سے پیش آتا ہ ۔ جس کے دلمیں علم ہے خدا کا وہ کسی کی برائی کرتا نہیں ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے سب کو ایک نظر سے دیکھتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے نظروں سے اب ھیات کی بارش کرتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے سب غلاموں سے نجات وہ پاتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے اس کی طرز زندگی پاک اپناتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے کھانا اسکا علم ہوجاتا ہے ۔ اے نانک جس کے دلمیں علم خدا ہے وہ خدا میں دھیان جماتا ہے ۔

ب٘رہم گِیانیِ ایک اوُپرِ آس ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا نہیِ بِناس ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ گریِبیِ سماہا ॥
ب٘رہم گِیانیِ پرئُپکار اُماہا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ ناہیِ دھنّدھا ॥
ب٘رہم گِیانیِ لے دھاۄتُ بنّدھا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ ہوءِ سُ بھلا ॥
ب٘رہم گِیانیِ سُپھل پھلا ॥
ب٘رہم گِیانیِ سنّگِ سگل اُدھارُ ॥
نانک ب٘رہم گِیانیِ جپےَ سگل سنّسارُ ॥੪॥
لفظی معنی:
(آسن ) آس ۔ امید ۔ وناس۔ خاتمہ ۔ سماہا۔ بستی ہے ۔ اماہا ۔ جوش و خروش۔ دھندا۔ وہ جنجال وہ کام جو دلی پیار یو جوش سے نہ کیا جائے ۔ دھاوت ۔ بھٹکتے ۔ بندھا ۔ ۔ روکتا ہے ۔ بھلا۔ نیک کام نیکی ۔ سھپل ۔ کامیاب۔ سگل ۔ سارے ۔ ادھار۔ بچاؤ۔ جچے ۔ گل سنسار۔سنار ۔ جہاں۔ توصیف کرتا ہے ۔
ترجمہ:
جسکے دلمیں علم خدا کا روحانی موت نہ مرتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا کا وہ عاجز اور مسکین ہوجاتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا کا دوسروں کی مدد کا دلمیں جوش ہوجاتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے وہ دنیاوی فضول جھنجھٹوں سے بالا ہو جاتا ہے جس کے دلمیں علم خدا ہے اس کی بھٹکن دور ہوجاتی ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے وہ ہمیشہ نیکی اور بھلائی کرتا ہے ۔ جس کے دلمیں ہے علم خدا زندگی برآور ہوجاتی ہے ۔ جس کے دلمیں ہے علم خدا سب ستاھیوں کو پار لگاتا ہے ۔ جس کے دلمیں علم خدا ہے سارا عالم ستائش کرتا ہے ۔

ب٘رہم گِیانیِ کےَ ایکےَ رنّگ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ بسےَ پ٘ربھُ سنّگ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ نامُ آدھارُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ نامُ پرۄارُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ سدا سد جاگت ॥
ب٘رہم گِیانیِ اہنّبُدھِ تِیاگت ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ منِ پرماننّد ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ گھرِ سدا اننّد ॥
ب٘رہم گِیانیِ سُکھ سہج نِۄاس ॥
نانک ب٘رہم گِیانیِ کا نہیِ بِناس ॥੫॥
لفظی معنی:
رنگ ۔ پیار۔ یکے ۔ واحد۔ وحدت ۔ سنگ۔ ساتھ۔ نام آدھار۔ نام کے سہارے ۔ پروار۔ قبیلہ ۔ سدا سد جاگت ۔ ہمیشہ بیدار۔ با ہوش و حواس ۔ اہنبدھ ۔ تکبر۔ تیاگت۔ چھوڑ دیتا ہے ۔ پرم آنند۔ بھاری سکون۔ آنند۔ سکون ۔ خوشیاں۔ سکہہ ۔ آرام و آسائش ۔ سکون۔ سہج ۔ قدرتی تسکین ۔ مکمل تسلی ۔ وناس۔ مٹاؤ۔ فناہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
برہم گیانی واحد خدا کا پیارا ہوتا ہے خدا بھی برہم گیانی کا ساتھی ہوجاتا ہے ۔ برہم گیانی الہٰی نام ہی سہارا ہے ۔ برہم گیانی کا نام الہٰی ہی کٹنب قیبلہ ہے ۔ برہم گیانی ہمیشہ با ہوش اور بیدار رہتا ہے ۔ برہم گیانی کا غرور و تکبر دور ہوجاتا ہے ۔ برہم گیانی کے دلمیں سکون روحانی رہتا ہے ۔ برہم گیانی کے دل میں سکون روحانی رہتا ہے ۔ برہم گیانی کے گھر ہمیشی خوشباشی رہتی ہے ۔ جس کے دلمیں علم الہٰی اے نانک و ہ کب مٹ جاتا ہے ۔

ب٘رہم گِیانیِ ب٘رہم کا بیتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ ایک سنّگِ ہیتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ ہوءِ اچِنّت ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا نِرمل منّت ॥
ب٘رہم گِیانیِ جِسُ کرےَ پ٘ربھُ آپِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا بڈ پرتاپ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا درسُ بڈبھاگیِ پائیِئےَ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کءُ بلِ بلِ جائیِئےَ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کءُ کھوجہِ مہیسُر ॥
نانک ب٘رہم گِیانیِ آپِ پرمیسُر ॥੬॥
لفظی معنی:
سگل۔ سارے ۔ بھید ۔ راز ۔ بیتا۔ راز دان۔ واقف ۔ شناخت کرنے والا۔ ایک سنگ ہیتا۔ واحدا خدا سے پیار۔ اچنت ۔ بیفکر ۔ نرمل۔ پاک۔ منت۔ نصیحت ۔ واعظ۔ د کلام۔ پر تاپ۔ وقار۔ شان۔ درس۔ دیدار۔ بل بل ۔ قربان۔ مہیسر ۔ خدا۔
ترجمہ معہ تشریح:
برہم گیانی راز دان الہٰی ہو جاتا ہے ۔ برہم گیانی کا پیار واحد خدا ہ سے ہوتا ہے ۔ برہم گیانی کے دلمیں بے فکری رہتی ہے ۔ برہم گیانی کی واعظ انسان کو پاک بناتی ہے ۔ برہم گیانی کو برہم گیانی خدا آپ بناتا ہے ۔ برہم گیانی با وقار بلند عظمت ہوجاتا ہے خدا کو جاننے والے کا دیدار خوش قسمتی سے ہوتا ہے جسے ہے علم الہٰی بار بار صدقے اس کے جائیں۔ علم الہٰی جاننے والے کو فرشتے بھی ڈہونڈتے رہتے ہیں اےنانک جسے ہے علم الہٰی وہ آپ خدائی ہے ۔

ب٘رہم گِیانیِ کیِ کیِمتِ ناہِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کےَ سگل من ماہِ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا کئُن جانےَ بھیدُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کءُ سدا ادیسُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا کتھِیا ن جاءِ ادھاکھ٘ز٘زرُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ سرب کا ٹھاکُرُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کیِ مِتِ کئُنُ بکھانےَ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کیِ گتِ ب٘رہم گِیانیِ جانےَ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا انّتُ ن پارُ ॥
نانک ب٘رہم گِیانیِ کءُ سدا نمسکارُ ॥੭॥
لفظی معنی:
بھید۔ راز۔ آدیس۔ آداب۔ سلام دعا ۔ کھتیا ۔ بیان نہیں ہو سکتا۔ ادھا کھر۔ آدھا لفظ ۔ ٹھاکر۔ آقا مالک ۔ مت۔ اندازہ ۔ شمار ۔ دکھانے ۔ تشریح۔ گت ۔ حالت۔ انت۔ آخر ۔ پار ۔ کنارہ ۔ سدنمسکار۔ سدا سلام۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دل میں علم الہٰی اس کے وصفوں کا کچھ موُلِ نہیں علم الہٰی جاننے والے کے دلمیں سارے وصف انسانی ہوتے ہیں۔ علم الہٰی جاننے والے کے راز کسے معلوم ہوتے ہین۔ علم الہٰی جاننے والے کو سلام آداب و سلام بار بار ۔ علم الہٰی جاننے والے کی تعریف میں ایک لفظ بیان سے قاصر ہیں علم الہٰی جاننے والا سب عالم کا مالک ہوجاتا ہے علم الہٰی جاننے والے کی عظمت کا کون اندازہ لا سکتا ہے ۔ علم الہٰی جاننے والے کی عظمت کو خدا کو جاننے والا ہی سمجھ سکتا ہے ۔ علم الہٰی جاننے والا لا محدود وصفوں کا مالک ہے ۔ اے نانک علم الہٰی جاننے والے کو سدا سلام سدا آداب ۔

ب٘رہم گِیانیِ سبھ س٘رِسٹِ کا کرتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ سد جیِۄےَ نہیِ مرتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ مُکتِ جُگتِ جیِء کا داتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ پوُرن پُرکھُ بِدھاتا ॥
ب٘رہم گِیانیِ اناتھ کا ناتھُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا سبھ اوُپرِ ہاتھُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کا سگل اکارُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ آپِ نِرنّکارُ ॥
ب٘رہم گِیانیِ کیِ سوبھا ب٘رہم گِیانیِ بنیِ ॥
نانک ب٘رہم گِیانیِ سرب کا دھنیِ ॥੮॥੮॥
لفظی معنی:
سر شٹ ۔ عالم ۔ جہاں۔ دنیا۔ سد۔ ہمیشہ ۔ مکت۔ نجات۔ آزادی۔ جگت۔ طریقہ ۔ جیئہ ۔ زندگی ۔ پورن ۔ کامل ۔ پرکہہ۔ انسان۔ بدھاتا۔ تجویز یں بنانے والا۔ منصوبہ ساز۔ منصوبے بنانے والا۔ اناتھ۔ جسکا کوئی مالک نہ ہو۔ ناتھ۔ مالک۔ سب اوپر ہاتھ بالا دستی ۔ امدادی ۔ سگل آکار۔ سارا عالم ۔ نرنکار۔ بلا حجم۔ بے مادہ ۔ خدا ۔ سوبھا۔ شہرت۔ بنی ۔ لائق۔ دھنی ۔مالک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
علم الہٰی کا راز دان روحانیت عالم کا کار ساز ہے ۔ علم الہٰی کا راز دان روحانی طور جاویداں ہے اخلاقی موت نہیں اُسے کا راز دان خدا کا نجات دہندہ طرز زندگی کا داتا ہے ۔ علم الہٰی کا راز دان کامل انسان اور منصوبہ ساز ہے ۔ علم الہٰی کا راز دان بے مالکوں کا مالک ہوتا ہے ۔ علم الہٰی کے رازدان کی سب اوپر بالا دستی ہے ۔ سارے عالم کا پھیلاؤ ہے اسکا برتارا ہے ۔ وہ ظاہر ایک خدا کی مانند ہی ہے ۔ علم الہٰی کے راز دان کی شان و شوکت اور شہرت عرفانی ہے ۔ اے نانک راز دار الہٰی سب کا مالک ہے ۔

سلوکُ ॥
اُرِ دھارےَ جو انّترِ نامُ ॥
سرب مےَ پیکھےَ بھگۄانُ ॥
نِمکھ نِمکھ ٹھاکُر نمسکارےَ ॥
نانک اوہُ اپرسُ سگل نِستارےَ ॥੧॥
لفظی معنی:
ار ۔ دل ۔ من۔ انتر۔ دلمیں۔ نام ۔ سچ یا حقیقت ۔ نام الہٰی۔ سرب ۔ سارے پیکھے ۔ دیکھتا ہے ۔ بھگوان ۔ خدا ۔ نمکہہ نمکہہ ۔ بار بار۔ ٹھاکر۔ آقا۔ خدا۔ نمسکلے ۔ سجدہ کرتا ہے ۔ آداب بجا لاتا ہے ۔ اپرس۔ انسانی چھوت سے باہر۔ سگل۔ سب کو ۔ نستارے ۔ کامیاب بناتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس انسان کے دل میں حقیقت اور نام الہٰی بستا ہے ۔ ہر ایک میں اسے نور الہٰی ہر بشر میں دیکھتا ہے ۔ ہر آنکھ جھپک میں خدا کو سجدے کرتا ہے ۔ اے نانک وہ پاک حقیقی ہے اور سب کو کامیاب بناتا ہے (1)

اسٹپدیِ ॥
مِتھِیا ناہیِ رسنا پرس ॥
من مہِ پ٘ریِتِ نِرنّجن درس ॥
پر ت٘رِء روُپُ ن پیکھےَ نیت٘ر ॥
سادھ کیِ ٹہل سنّتسنّگِ ہیت ॥
کرن ن سُنےَ کاہوُ کیِ نِنّدا ॥
سبھ تے جانےَ آپس کءُ منّدا ॥
گُر پ٘رسادِ بِکھِیا پرہرےَ ॥
من کیِ باسنا من تے ٹرےَ ॥
اِنّد٘ریِ جِت پنّچ دوکھ تے رہت ॥
نانک کوٹِ مدھے کو ایَسا اپرس ॥੧॥
لفظی معنی:
متھیا ۔ جھوٹ۔ رسنا۔ زبان۔ پرس۔ چھوٹے ۔ من میہہ ۔ دلمیں۔ پریت۔ پیار۔ عشق ۔ محبت۔ نرنجن درس۔ بیداغ خدا کے دیدار۔ پر تریہ۔ بیگانی عورت۔ روپ ۔ شکل۔ پیکہے پیکہے ۔ نیتر۔ آنکھون سے ۔ سادھ ۔ پاکدامن۔ ٹہل۔ خدمت ۔ سنت سنگ ۔ خدا رسیدہ کی صحبت و قربت ۔ ہیت ۔ پیار۔ کرن۔ کان ۔ کاہو۔ کسی کی ۔ نندا۔ بد گوئی ۔ آپس ۔ خود کو ۔ مندا۔ برا۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔ وکھیا۔ دنیاوی مادیاتی برے کام۔ پر ہرئے ۔ ختم کرئے ۔ متائے ۔ چھوڑے ۔ بستا۔ خواہش۔ امنگ۔ ٹرے ۔ مٹائے ۔ اندری جت۔ اعضے نفسانی پر قابو پر قابو پانے والا۔ پنچ دوکہہ۔ کام ۔ یعنی شہوت۔ کرودھ ۔ غصہ ۔ لوبھ۔ لالچ ۔ موہ ۔ محبت۔ اہنکار۔ تکبر۔ کوٹ مدھے ۔ کروڑوں میں سے ۔ اپرس۔ ( ویسنو ) پاک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو زبان پر اپنی جہوٹ نہ لائے ۔ دلمیں چاہ ہو پاک خدا کے دیدار کی ۔ شکل بیگانی عورت اور حس کو آنکھوں نہ دیکہے ۔ خادم ہو وہ پاکدامن کا عارفوں کی صحبت کا پیار ہو۔ کانوں سے سنے نکسی کی بدگوئی۔ خود کو سمجھے سب سے ادنے رحمت مرشد سے برائیاں دور کرئے ۔ نفسانی خواہشات دل سے مٹائے ۔ پانچو عیبوں پر قابو پاکر نفس کو وہ جیت جائے ۔ نیک ہے وہ اے نانک کروڑوں انسانوں میں ایسا جو پاک کہلائے ۔ بلند عظمت و حشمت ہے وہ (1)

بیَسنو سو جِسُ اوُپرِ سُپ٘رسنّن ॥
بِسن کیِ مائِیا تے ہوءِ بھِنّن ॥
کرم کرت ہوۄےَ نِہکرم ॥
تِسُ بیَسنو کا نِرمل دھرم ॥
کاہوُ پھل کیِ اِچھا نہیِ باچھےَ ॥
کیۄل بھگتِ کیِرتن سنّگِ راچےَ ॥
من تن انّترِ سِمرن گوپال ॥
سبھ اوُپرِ ہوۄت کِرپال ॥
آپِ د٘رِڑےَ اۄرہ نامُ جپاۄےَ ॥
نانک اوہُ بیَسنو پرم گتِ پاۄےَ ॥੨॥
لفظی معنی:
ویسنو۔ جس کی وسنو پر عقیدہ یا وشواش ہے ۔ وسنو کا عقیدتمند۔ جس پر خود خدا فدا ہے ۔ سو۔ وہی ۔ سو پرسن۔ جس پر خدا خود ہے ۔ یسن۔ رازق عالم۔ خدا۔ پرودیگار۔ مائیا۔ دنیاوی دولت۔ بھن۔ علیحدہ ۔ کرم کرت۔ کام کرتے ہوئے ۔ نہکرم ۔ نہ کرنے والا۔ نرمل۔ پاک۔ دھرم ۔ مذہبی یا انسانی فرض۔ کاہو۔ کسی سے ۔ کبھی ۔ پھل ۔ کام کا عوضانہ ۔ اچھا۔ خواہش۔ باچھے ۔ چاہے ۔ کیول۔ صرف۔ بھگت۔ عشق عاشق الہٰی ۔ عبادت ۔ بندگی ۔ کیرتن۔ صف صلاح۔ سنگ۔ ساتھ۔ راچے ۔ سے محبت ہو۔ من تن۔ دل وجان۔ انتر ۔ دلمیں سمرن گوپال۔ یاد خدا۔ کرپال۔ مہربان ۔ آپ ۔ خود۔ درڑے ۔ پکا کرے ۔ اوریہہ۔ دوسروں کو ۔ پرم گت۔ بلند سے بلند رتبہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس پر خدا خود خوش ہے وہی ویسنو کا عقیدتمند ہے ۔ جو ویسنو ساسی کو جانو دنیاوی دولت سے جس کی دوری ہے ۔ اعمال کرتے ہوئے بھی پھل کی امید نہ رکھے خواہش نہ ہو دلمیں اس ویسنو کا ہے پاک عقیدہ ۔ سچے خدا کی کرئے عبادت اور الہٰی حمدوثناہ کرئے ۔ وہ سب پر رحمت کرنے والا ہے ۔ آپ بھی یاد کرے وہ اور اوروں کو یاد کرائے ۔ اے نانک ایسا ویسنو بلند روحانی رتبہ پاتا ہے ۔

بھگئُتیِ بھگۄنّت بھگتِ کا رنّگُ ॥
سگل تِیاگےَ دُسٹ کا سنّگُ ॥
من تے بِنسےَ سگلا بھرمُ ॥
کرِ پوُجےَ سگل پارب٘رہمُ ॥
سادھسنّگِ پاپا ملُ کھوۄےَ ॥
تِسُ بھگئُتیِ کیِ متِ اوُتم ہوۄےَ ॥
بھگۄنّت کیِ ٹہل کرےَ نِت نیِتِ ॥
منُ تنُ ارپےَ بِسن پریِتِ ॥
ہرِ کے چرن ہِردےَ بساۄےَ ॥
نانک ایَسا بھگئُتیِ بھگۄنّت کءُ پاۄےَ ॥੩॥
لفظی معنی:
بھگوتی ۔ الہٰی عاشق کا نام ہے ۔ بھگت کا رنگ ۔ جسے الہٰی حمدوثناہ سے محبت اور پریم ہے ۔ دشٹ ۔ بدکدار ۔ بد اعمال۔ سنگ ۔ صحبت۔ بھرم۔ شک و شبہات ۔ سگل پار برہم۔ سب کو خدا سمجھ کر۔ بھگونت ۔ خدا۔ من تن۔ دل وجان۔ ارپے ۔ بھینٹ کر دے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بھگوتی ہے وہی جس کے دلمیں ہے عشق خدا۔ اورچھوڑے صحبت بدکاروں کی ۔ دل سے سب شکوک مٹا کر ہرجائی سمجھے پاک خدا۔ پاکدامنوں کی صحبت میں رہ کر گناہوں کی پلیدی و ناپاکی دور کرئے ۔ ایسا بھگوتی ( عاشق الہٰی ) بلند عقل کا مالک ہے ۔ خدا کا جو ہر دم خادم اور دل و جان سے خدا کا پیارا ہے ۔ اور دل و جان خدا کے پیار کی بھینٹ چڑھاتا ہے ۔ اپنے دل کے مندر میں پائے خدا بساتا ہے ۔ اے نانک ایسا بھگوتی ( عاشق الہٰی ) پاک خدا کو پاتا ہے ۔

سو پنّڈِتُ جو منُ پربودھےَ ॥
رام نامُ آتم مہِ سودھےَ ॥
رام نام سارُ رسُ پیِۄےَ ॥
اُسُ پنّڈِت کےَ اُپدیسِ جگُ جیِۄےَ ॥
ہرِ کیِ کتھا ہِردےَ بساۄےَ ॥
سو پنّڈِتُ پھِرِ جونِ ن آۄےَ ॥
بید پُران سِم٘رِتِ بوُجھےَ موُل ॥
سوُکھم مہِ جانےَ استھوُلُ ॥
چہُ ۄرنا کءُ دے اُپدیسُ ॥
نانک اُسُ پنّڈِت کءُ سدا ادیسُ ॥੪॥
لفظی معنی:
پر بودھے ۔ بیدار کرتا ہے ۔ آتم مینہہ۔ اپنی روح کے اندر۔ اپنے ذہن میں ۔ سودھے ۔ درست کرتا ہے ۔ سار۔ بنیاد۔ حقیقت۔ رس ۔ لطف۔ اپدیس ۔ واعظ ۔ نصیحت ۔ جگ جیوئے ۔ ایک زمانے کو روحانی زندگی ملتی ہے ۔ ہر وے ۔ دلمیں۔ جون نہ آوے ۔ تناسخ میں نہیں پڑتا ۔ مول۔ بنیاد۔ سوکھم۔ باطن ۔ استھول ۔ ظاہر۔ چوہ ورنا۔ چاروں ذاتوں یا فرقوں ۔ برہمن۔ کھتری ۔ ویش اور شودر۔ اپدیش ۔ سبق۔ آویس۔ آداب۔ سلام۔
ترجمہ معہ تشریح:
اسے ہی پنڈت سمجھو جو دل کو روشن کرتا ہے اور سمجھاتا ہے ۔ نام الہٰی پیار دل میں اپنے اس کی جستجو کرتا ہے ۔ وہ نام جسکا لطف ہے آبحیات وہ اس آبحیات کا لطف اُٹھاتا ہے ا پنڈت کی واعظ سے سارے عالم کو زندگی روحانی ملتی ہے ۔ وہ پنڈت الہٰی کہانی دلمیں خوب بساتا ہے ۔ وہ پنڈت پھر عالم میں کب تناسخ پاتا ہے ۔ اصل حقیقت اور سچ کو کھوبے ویدوں اور پرانوں میں نرنکار کو آکار میں سمجھے ظاہر کو ڈہونڈے باطن میں چاروں درنوں اور زاتوں کرے ایک ہی واعظ ۔ اے نانک ۔ ایسے پنڈت کو ہمیشہ آداب ہمیشہ سلام و آداب۔

بیِج منّت٘رُ سرب کو گِیانُ ॥
چہُ ۄرنا مہِ جپےَ کوئوُ نامُ ॥
جو جو جپےَ تِس کیِ گتِ ہوءِ ॥
سادھسنّگِ پاۄےَ جنُ کوءِ ॥
کرِ کِرپا انّترِ اُر دھارےَ ॥
پسُ پ٘ریت مُگھد پاتھر کءُ تارےَ ॥
سرب روگ کا ائُکھدُ نامُ ॥
کلِیانھ روُپ منّگل گُنھ گام ॥
کاہوُ جُگتِ کِتےَ ن پائیِئےَ دھرمِ ॥
نانک تِسُ مِلےَ جِسُ لِکھِیا دھُرِ کرمِ ॥੫॥
لفظی معنی:
بیج منتر۔ بنیادی کلام یا تمام کلاموں کا بیج بنیاد۔ علم ہے ۔ چوہ درنا۔ چاروں ذاتوں ۔ گت ۔ نجات۔ سادھ سنگ ۔ صحبت پاکدامن۔ انتر اردھارے ۔ دلمیں بسائے ۔ پسو پس ۔ حیوان ۔ پریت۔ بد روح۔ مگدھ۔ جاہل ۔ پتھر ۔ سخت دل ۔ آؤکھد۔ دوائی۔ کلیان۔ آرام وآسائش ۔ منگل۔ خوشیاں۔ گن۔ وصف۔ جگت۔ طریقے سے ۔ دھرم۔ فرض انسانی ۔ مذہبی رسم و رواج۔ دھر ۔ الہٰی حضور سے ۔ کرم ۔ بخشش ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سب شبدوں اور کلاموں کی بنیا د و علم ہے ۔ چاروں ونوں اور ذاتوں فرقوں میں جو بھی نام الہ ٰی جپتا ہے ۔ جو بھی جپتا ہے یاد کرتا ہے وہ درنجات کا پاتا ہے ۔ کوئی ہی انسان صحبت و قربت پاکدامناں پاتا ہے ۔ جس پر اس کی کرم و عنایت وہی دل میں نام بساتا ہے ۔ وحشی ۔ جاہل۔ بد روح اور سخت دل سب کو پار لگاتا ہے ۔ نام خدا ہے ایک دوائی۔ سب بیماریاں ختم کرتاہے ۔۔ خوشحالی ۔ خوبصورتی اور خوشی وصف الہٰی گاتا ہے اسکا اور نہ راستہ کوئی کچھ نہیں مذہبی کرموں میں اے نانک۔ اسے ہی ملتا ہے درج ہے جس کے اعمالناموں میں۔

جِس کےَ منِ پارب٘رہم کا نِۄاسُ ॥
تِس کا نامُ ستِ رامداسُ ॥
آتم رامُ تِسُ ندریِ آئِیا ॥
داس دسنّتنھ بھاءِ تِنِ پائِیا ॥
سدا نِکٹِ نِکٹِ ہرِ جانُ ॥
سو داسُ درگہ پرۄانُ ॥
اپُنے داس کءُ آپِ کِرپا کرےَ ॥
تِسُ داس کءُ سبھ سوجھیِ پرےَ ॥
سگل سنّگِ آتم اُداسُ ॥
ایَسیِ جُگتِ نانک رامداسُ ॥੬॥
لفظی معنی:
نواس۔ ٹھکانہ ۔ رہائش۔ ست۔ سچ ۔ حقیقت۔ رامداس۔ خادم خدا۔ آتم رام۔ سب کے روح وزہن نشین ۔ روحانی خدا۔ ندریں آئیاں۔ نظارہ کیا۔ آنکھوں سے دیدار کیا۔ داس۔ دسنتن بھائے ۔ غلاموں کے غلام ہونے کے خیال سے ۔ نکٹ۔ نزدیک۔ درگیہہ پروان ۔ بارگاہ الہٰی میں قبول۔ سوجہی ۔ سمجھ ۔ سگل سنگ۔ سب کے ساتھ۔ آتم اداس۔ روحانی پریشانی ۔ ایسی جگت ۔ ایسے طریقے سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دلمیں بستا ہے حقیقتاً وہی ہے خادم کدا اسکا حقیقی نام سچ ہے اور خادم خدا اس نے اپنی نظروں سے دیدار خدا ہے پائیا۔ خادموں کا خادم ہونے کے پیار سے خدا ہے پائیا۔ سدا قریبی ہے وہ قربت اس کی سمجھو ایسا خادام بار گاہ الہٰی قبول ہوتا ہے ۔ ایسے خادم پر خود خدا کرم و عنایت کرتا ہے ۔ اسے س اری سمجھ آجائیگی اس خادم کو۔ سب کا ساتھی ہونے پر بھی وہ طارق رہتا ہے ۔ اے نانک۔ اس طریقے سے وہ خادم خدا بن جاتا ہے ۔

پ٘ربھ کیِ آگِیا آتم ہِتاۄےَ ॥
جیِۄن مُکتِ سوئوُ کہاۄےَ ॥
تیَسا ہرکھُ تیَسا اُسُ سوگُ ॥
سدا اننّدُ تہ نہیِ بِئوگُ ॥
تیَسا سُۄرنُ تیَسیِ اُسُ ماٹیِ ॥
تیَسا انّم٘رِتُ تیَسیِ بِکھُ کھاٹیِ ॥
تیَسا مانُ تیَسا ابھِمانُ ॥
تیَسا رنّکُ تیَسا راجانُ ॥
جو ۄرتاۓ سائیِ جُگتِ ॥
نانک اوہُ پُرکھُ کہیِئےَ جیِۄن مُکتِ ॥੭॥
لفظی معنی:
آگیا۔ فرمان۔ رضا۔ آتم۔ روحانی دلمیں۔ بتاوے ۔ سے ولی پیا ر کرئے ۔ جیون۔ دوران حیات۔ سوؤ۔ وہی ۔ ہر کہہ۔ خوشی۔ سوگ۔ افسوس۔ غمی۔ غمگینی ۔ بیوگ۔ جدائی۔ علیحدگی ۔ سورن۔ سونا۔ ماٹی۔ خاک۔ انمرت۔ آبحیات ۔ زندگی کو دائمی بنانے والا پانی ۔ وکہہ۔ زہر۔ مان۔ عزت۔ وقار۔ ابھیمان۔ غرور ۔ تکبر۔ گھمنڈ۔ رنک۔ غریب۔ نادار۔ کنگال۔ راجان ۔ حکمران۔ ورتائے ۔ فرمائے ۔ چلائے ۔ جگت۔ طریقہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جسے فربان الہٰی رضائے الہٰی دل و جان سے پیارا ہے ۔ دوران حیات نجات ہے اس کو حیات میں نجاتی کہلاتا ہے ۔ خوشی اور غمی بھی یکسان ہے ۔ اس کا اس پر کوئی تاثر نہیں ۔ سدا رہے سکون میں نہیں جدائی اسے کہیں کبھی ۔ ایک یکساں سے سمجھے سب کو کیا سونا کیا مائی ہے ۔ خواہ انمرت جیسی مٹھی شے ہو زہریلی یا گھٹی ہے ۔ یکساں ہے اس کے لئے خواہ خواری ذلالت ہو خواہ عزت و حشمت ہے ۔ یکساں ہے اس کے لئے خواہ نادار ہو یا حکمرانی ہے ۔ جو ہوتا ہے وہی طرز زندگی ہے ۔ جو خدا کا فرمان ہے اے نانک۔ وہ انسان دوران حیات نجات یافتہ کہلاتا ہے ۔

پارب٘رہم کے سگلے ٹھاءُ ॥
جِتُ جِتُ گھرِ راکھےَ تیَسا تِن ناءُ ॥
آپے کرن کراۄن جوگُ ॥
پ٘ربھ بھاۄےَ سوئیِ پھُنِ ہوگُ ॥
پسرِئو آپِ ہوءِ انت ترنّگ ॥
لکھے ن جاہِ پارب٘رہم کے رنّگ ॥
جیَسیِ متِ دےءِ تیَسا پرگاس ॥
پارب٘رہمُ کرتا ابِناس ॥
سدا سدا سدا دئِیال ॥
سِمرِ سِمرِ نانک بھۓ نِہال ॥੮॥੯॥
لفظی معنی:
سگلے تھاؤ۔ ہر جگہ خدا ہے ۔ جت جت ۔ جاہں جہان۔ تن ناو۔ ان کا نام۔ جوگ۔ لائق۔ توفیق قوت رکھا ہے ۔ من۔ وہی ۔ پسریو۔ پھیلاو۔ اننت ۔ بیشمار۔ ترنگ ۔ لہروں۔ ہکہے نہ جاہے ۔ بیان نہیں ہو سکتے ۔ مت۔ عقل۔ سمجھ۔ پر گاس۔ روشنی۔ کرتا۔ کار ساز۔ کرنے والا۔ او ناس ۔ لافناہ ۔ دیال ۔ مہربان۔ نہال۔ خوش۔ پھول کی مانند کھلنا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہر جاہر مقام الہٰی ہر جا وہ بستا ہے ۔ جہاں جہاں کسی جاندار کو رکھتا ہے ویسا نام اسکا ہوجاتا ہے ۔ خدا ہی کار کراتا ہے کرانتے کی قوت رکھتا ہے جیسی اس کی خواہش ہے ویسا ہی ہوجاتا ہے ۔ بیشمار لہروں میں خدا نے اپنا آپ پھیلائیا ہے ۔ کھیل خدائی بیان کیسے ہو سکتے ہیں۔ اس کے کھیل انوکھے ہیں۔ جیسی عقل عنایت کرتا ہے کسی کو اتنا ہی من اسکا نورانی ہوجاتا ہے ۔ ہر دم ہر وقت اسے تم رحمت والا رحمان پاؤ گے ۔ کرو عبادت یاد کرؤ ۔ اے نانک۔ پھر تم جشن مناؤ گے ۔

سلوکُ ॥
اُستتِ کرہِ انیک جن انّتُ ن پاراۄار ॥
نانک رچنا پ٘ربھِ رچیِ بہُ بِدھِ انِک پ٘رکار ॥੧॥
لفظی معنی: ترجمہ معہ تشریح:
بیشمار انسان حمد ہیں کرتے اس کی لا محدود ہے جو ۔ یہ عالم نانک اس نے بہت قسموں کی بہت طریقوں سے بنائیا ہے ۔

اسٹپدیِ ॥
کئیِ کوٹِ ہوۓ پوُجاریِ ॥
کئیِ کوٹِ آچار بِئُہاریِ ॥
کئیِ کوٹِ بھۓ تیِرتھ ۄاسیِ ॥
کئیِ کوٹِ بن بھ٘رمہِ اُداسیِ ॥
کئیِ کوٹِ بید کے س٘روتے ॥
کئیِ کوٹِ تپیِسُر ہوتے ॥
کئیِ کوٹِ آتم دھِیانُ دھارہِ ॥
کئیِ کوٹِ کبِ کابِ بیِچارہِ ॥
کئیِ کوٹِ نۄتن نام دھِیاۄہِ ॥
نانک کرتے کا انّتُ ن پاۄہِ ॥੧॥
لفظی معنی:
کوٹ ۔ کروڑ۔ پجاری ۔ پرستش کرنے والے ۔ آچار۔ اخلاق۔ بیوہاری ۔ رسومات۔ تیرھ داسی ۔ زیارت گاہوں پر رہنے والے ۔ بن۔ جنگل ۔ بھرمیہہ۔ گھومنے والے ۔ اداسی ۔ طارق الدنیا۔ سروتے ۔ سننے والے ۔ تپیسر ۔ تپسیا کرنے والے ۔ آتم ۔ روح۔ دھیان۔ توجہ ۔ دھارے ۔ اپنی روح یا ذہن میں اپنی توجہ مرکوز کرتے ہین۔ ذہن نشین ۔ ہوش و حواس کو یکسو کرتے ہیں۔ گو۔ کوئی ۔ شاعر۔ کاو۔ کوتا۔ نظم۔ ویچاریہہ۔ خیال آرائی کرتے ہیں۔ سوچتے ہیں۔ توتن۔ نیا نام۔
ترجمہ معہ تشریح:
کروڑوں ہی انسان الہٰی پر ستش کرتے ہیں۔ کروڑوں ہی انسان با اخلاق اور رسومات ادا کرتے ہیں ۔ کروڑوں ہی انسان زیارت گاہوں پر رہتے ہیں۔ کروڑوں ہی انسان جنگلوں میں طارق بن کر رہتے ہیں۔ کروڑوں ہی ویدوں کو سننے والے ہیں۔ کروڑوں ہی زاہد زہر کماتے ہیں۔ کروڑوں ہی انسان ہوش اپنی کو ذہن میں مرکوز ہیں کرتے ۔ کروڑوں ہی انسان شاعروں کی شاعری پر وچاریں ہیں کرتے ۔ کروڑوں ہی انسان خدا کو نیئے نئے ناوں سے یاد کرتے ہین۔ اے نانک اس خالق کا اس راق کا شمار نہ پائیا ہے ۔

کئیِ کوٹِ بھۓ ابھِمانیِ ॥
کئیِ کوٹِ انّدھ اگِیانیِ ॥
کئیِ کوٹِ کِرپن کٹھور ॥
کئیِ کوٹِ ابھِگ آتم نِکور ॥
کئیِ کوٹِ پر درب کءُ ہِرہِ ॥
کئیِ کوٹِ پر دوُکھنا کرہِ ॥
کئیِ کوٹِ مائِیا س٘رم ماہِ ॥
کئیِ کوٹِ پردیس بھ٘رماہِ ॥
جِتُ جِتُ لاۄہُ تِتُ تِتُ لگنا ॥
نانک کرتے کیِ جانےَ کرتا رچنا ॥੨॥
لفظی معنی:
ابھیمانی ۔ مغرور۔ اند اگیانی ۔ جاہل۔ کرپن۔ کنجوس ۔ کٹھور ۔ سخت دل ۔ بیرحم ۔ ابھگ ۔ نا پیسنے والے ۔ جن پر کوئی اثر نہ ہو۔ آتم نکور۔ روحانی طور پر ۔ بسے سمجھ۔ انسانیت سے خالی ۔ دربھ۔ دولت۔ پر ۔ بیگانہ ۔ بریہہ چراتے ہین۔ پر دوکھنا۔ دوسروں پر الزام تراشی۔ سرم۔ محنت و مشقت ۔ بھرماہے ۔ بھٹکتے پھرتے ہیں۔ جت جت ۔ جہاں جہاں۔ لاویہہ۔ لگاتا ہے ۔ تت تت ۔ وہاں وہان۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس عالم میں کرؤروں ہی مغررو ہوتے ہیں ۔ کروڑوں ہی جاہل بے علم بے نور ہوئے ہیں۔ کرؤروں ہی پتھر جیسے دل والے اور کنجو س ہوئے ہیں۔ کروڑوں ہی بے ترس جنکو کسی پر ترس نہیں ہوئے ہیں۔ کروڑوں دوسروں کی دولت وہ چراتے ہیں۔ کروڑوں ہی ایسے دولت کی خاطر محنت و مشقت کماتے ہیں۔ کروڑوں ہی ں ایسے جو دیس بدیش کو جاتے ہیں ۔ جہاں جہاں خدا رکھے نانک وہاں وہاں ہی رہنا ہے ۔ اپنی خلقت وہ خو دہی جانتا ہے خالق کا کیا کہنا ہے ۔

کئیِ کوٹِ سِدھ جتیِ جوگیِ ॥
کئیِ کوٹِ راجے رس بھوگیِ ॥
کئیِ کوٹِ پنّکھیِ سرپ اُپاۓ ॥
کئیِ کوٹِ پاتھر بِرکھ نِپجاۓ ॥
کئیِ کوٹِ پۄنھ پانھیِ بیَسنّتر ॥
کئیِ کوٹِ دیس بھوُ منّڈل ॥
کئیِ کوٹِ سسیِئر سوُر نکھ٘ز٘زت٘ر ॥
کئیِ کوٹِ دیۄ دانۄ اِنّد٘ر سِرِ چھت٘ر ॥
سگل سمگ٘ریِ اپنےَ سوُتِ دھارےَ ॥
نانک جِسُ جِسُ بھاۄےَ تِسُ تِسُ نِستارےَ ॥੩॥
لفظی معنی:
سدھ۔ جنہوں نے اپنے اخلاق اطوار کو درست کر لیا۔ جتی ۔ جنہون نے شہوت کو زیر کر لیا ۔ رس بھوگی ۔ لطف لینے والے ۔ پنکہی ۔ پرندے ۔ سرپ۔ سانپ۔ برکہہ ۔ شجر ۔ درخت ۔ بھومنڈل۔ زمینی خطے ۔ سیئر ۔ چاند۔ سور۔ سورج۔ نکھتر ۔ تارے ۔ دیو۔ فرشتے۔ دانو ۔ راکھشش ۔ ظالم۔ سگل سمگری۔ ساری قائنات ۔ اپنے سوت۔ زیر نظام ۔ نستارے ۔ کامیاب بناتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس خالق کی خلقت میں کروڑوں ہی خدا رسیدہ ہیں جنہوں نے اپنا اخلاق درست بنائیا ہے ۔ کروڑوں ہی نے شہوت پر قابو پائیا ہے ۔ کروڑوں ہی نے جوگی کہلائیا ہے ۔ کروڑوں نے ہی نعمتوں کا لطف اُٹھائیا ہے ۔
کروڑوں ہی پرندے اور سانپ کئے ہیں پیدا کرؤروں پتھر اور پیسٹر کیے ہیں پیدا۔ کروڑوں قسموں کی آگ ہوا اور پانی ہے ۔ گروڑوں م ہیں زمین کے خطے کروڑوں اور اقلمیں ہیں۔ کروڑوں چاند ۔ سورج اور ارے ہیں۔ کروڑوں فرشتے اور یدروحیں کرؤروں جن کے سر پر چھتر جھولتے ہین۔ ساری قائنات کا نظام قائم کرکے خود اسکا رکھوالا ہے ۔ اے نانک جسے چاہتا ہے کامیاب بنانےو الا ہے ۔

کئیِ کوٹِ راجس تامس ساتک ॥
کئیِ کوٹِ بید پُران سِم٘رِتِ ارُ ساست ॥
کئیِ کوٹِ کیِۓ رتن سمُد ॥
کئیِ کوٹِ نانا پ٘رکار جنّت ॥
کئیِ کوٹِ کیِۓ چِر جیِۄے ॥
کئیِ کوٹِ گِریِ میر سُۄرن تھیِۄے ॥
کئیِ کوٹِ جکھ٘ز٘ز کِنّنر پِساچ ॥
کئیِ کوٹِ بھوُت پ٘ریت سوُکر م٘رِگاچ ॥
سبھ تے نیرےَ سبھہوُ تے دوُرِ ॥
نانک آپِ الِپتُ رہِیا بھرپوُرِ ॥੪॥
لفظی معنی:
راجس ۔ حکومتی ۔ ترقی۔ تامس۔ لالچ۔ ساتک ۔ سچ ۔ سچائی۔ رتن۔ قیمتی ہیرے موتی وغیرہ ۔ نانا پرکار۔ بیشمار قسموں کے ۔ جنت ۔ جاندار۔ چر جیوے ۔ لمبی عمر والے ۔ گری ۔ پہاڑ۔ میر سورن۔ سونے کے پہاڑ۔ تھیوئے ۔ ہوئے ہین۔ جکہہ ۔ کفر۔ پساچ۔ طرح طرح کے انسان اور فرشتے ۔ بصورت ۔ پیرت ۔ بد روحیں۔ سوکر۔ سر سور۔ خنیز۔ میر گاچ ۔ شیر ۔ الپت ۔ بیلاگ ۔ بیداغ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کروڑوں ہیں ایسے محنت و مشقت کرتے کرتے ماند ہوجاتے ہیں ۔ کروڑوں کو خدا نے دولت مند بنائیا ہے ۔ کروڑوں ہی کو فکر ہے دولت کمانے کے ۔ جیسی اس کی مرضی ہے وہاں وہاں وہ رکھتا ہے خود ہی قادر کرتا ہے ۔ اے نانک۔ قادر کل ہے وہ ہر بات کا وہ مالک ہے ۔

کئیِ کوٹِ پاتال کے ۄاسیِ ॥
کئیِ کوٹِ نرک سُرگ نِۄاسیِ ॥
کئیِ کوٹِ جنمہِ جیِۄہِ مرہِ ॥
کئیِ کوٹِ بہُ جونیِ پھِرہِ ॥
کئیِ کوٹِ بیَٹھت ہیِ کھاہِ ॥
کئیِ کوٹِ گھالہِ تھکِ پاہِ ॥
کئیِ کوٹِ کیِۓ دھنۄنّت ॥
کئیِ کوٹِ مائِیا مہِ چِنّت ॥
جہ جہ بھانھا تہ تہ راکھے ॥
نانک سبھُ کِچھُ پ٘ربھ کےَ ہاتھےَ ॥੫॥
یہ حصہ درج نہیں ہیں
کئیِ کوٹِ بھۓ بیَراگیِ ॥
رام نام سنّگِ تِنِ لِۄ لاگیِ ॥
کئیِ کوٹِ پ٘ربھ کءُ کھوجنّتے ॥
آتم مہِ پارب٘رہمُ لہنّتے ॥
کئیِ کوٹِ درسن پ٘ربھ پِیاس ॥
تِن کءُ مِلِئو پ٘ربھُ ابِناس ॥
کئیِ کوٹِ ماگہِ ستسنّگُ ॥
پارب٘رہم تِن لاگا رنّگُ ॥
جِن کءُ ہوۓ آپِ سُپ٘رسنّن ॥
نانک تے جن سدا دھنِ دھنّنِ ॥੬॥
لفظی معنی:
ویراگی ۔ طارق الدنیا۔ لو ۔ محبت۔ کھوجنتے ۔ تلاش کرتے ۔ جستجو ۔ آتم مینہہ ۔ ذہن میہہ ۔ دل و دماغ میں۔ لہنتے ۔ ڈہونڈتے ہیں۔ پیاس۔ خواہش۔ اوناس۔ لافناہ ۔ ست سنگ۔ سچا ساتھ۔ صحبت و قربت پاکدمناں ۔ رنگ۔ پریم پیار ۔ سوپرسن۔ خوش۔ دھن دھن۔ خوش قسمت۔
ترجمہ معہ تشریح:
کروڑوں م ہیں اس عالم میں جو طارق الدنیا ہیں۔ جن کو رب کے نام کا عشق ہے رب کے پیارے ہیں۔ کروڑوں ہی جستجو میں خدا کی خدا کو ڈہونڈتے ہیں۔ اور خدا کو اپنے ہی اندر پاک خدا کو پاتے ہیں۔ کروڑوں ہیں دنیا میں جن کو دیدار خدا کی پیاس رہتی ہے ۔ ان کو وصل میسر لا فناہ جدا کا ہوتا ہے ۔ کروڑوں ہی انسان چاہتے ہیں صحبت و قربت پاکدامن کی انہیں عشق الہٰی رہتا ہے ۔ اے نانک۔ وہ قسمت والے ہیں جن پر خدا خوش ہوتا ہے ۔

کئیِ کوٹِ کھانھیِ ارُ کھنّڈ ॥
کئیِ کوٹِ اکاس ب٘رہمنّڈ ॥
کئیِ کوٹِ ہوۓ اۄتار ॥
کئیِ جُگتِ کیِنو بِستھار ॥
کئیِ بار پسرِئو پاسار ॥
سدا سدا اِکُ ایکنّکار ॥
کئیِ کوٹِ کیِنے بہُ بھاتِ ॥
پ٘ربھ تے ہوۓ پ٘ربھ ماہِ سماتِ ॥
تا کا انّتُ ن جانےَ کوءِ ॥
آپے آپِ نانک پ٘ربھُ سوءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
کھاتی ۔ منبع ۔ پیدائش ۔ کھنڈ۔ زمین کے حصے ۔ براعظم۔ آکاس۔ آسمان۔ برہمنڈ۔ عالم۔ دنیا۔ وستھار۔ پھیلاؤ۔ پسر یو۔ پھیلا ۔ سدا ۔ سدا۔ ہمیشہ۔ اینکار۔ واحد ۔ وحدت ۔ بہو ھات۔ بہت سی قسمیں۔ پربھ تے ہوئے ۔ خدا سے پیدا ہوئے ۔ پربھ ماہے سمات۔ خدا میں مجذوب ہوگئے ۔ انت۔ آخر۔ اوتار۔ پیدا ہوئے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کروڑوں ہیں کانیں اور زمینیں ۔ کروڑوں آسمان اور عالم ہیں۔ کروڑوں ہی پیدا ہوئے اس علام میں بیشمار طریقوں سے یہ عالم پھیلائیا ہ ۔ بہت دفعہ پھیلاؤ ہوا ہے عالم کا ۔ واحد خدا ہمیشہ قائم دائم رہتا ہے ۔ قسم قسم کی کروڑوں چیزیں پاک خدا نے بنائی ہیں۔ پیدا کین سب پاک خدا نے پاک خدا میں مل جاتی ہیں۔ اس کی سمجھ نہیں کسی کو اندازہ نہ کتھے لگائیا ہے ۔ اے نانک وہ لاثانی ہے ۔ اور خود نے خود کو بنائیا ہے ۔

کئیِ کوٹِ پارب٘رہم کے داس ॥
تِن ہوۄت آتم پرگاس ॥
کئیِ کوٹِ تت کے بیتے ॥
سدا نِہارہِ ایکو نیت٘رے ॥
کئیِ کوٹِ نام رسُ پیِۄہِ ॥
امر بھۓ سد سد ہیِ جیِۄہِ ॥
کئیِ کوٹِ نام گُن گاۄہِ ॥
آتم رسِ سُکھِ سہجِ سماۄہِ ॥
اپُنے جن کءُ ساسِ ساسِ سمارے ॥
نانک اوءِ پرمیسُر کے پِیارے ॥੮॥੧੦॥
لفظی معنی:
پار برہم کے داس۔ الہٰی خادم۔ تن ۔ انہیں۔ ہووت ۔ ہوتا ہے ۔ پر گاس۔ روشن۔ تت۔ حقیقت۔ اصلیت ۔ بیتے ۔ جاننے والے ۔ یہاریہہ۔ دیکھتے ہیں۔ ایکو نیترے ۔ ایک آنکھ سے ۔ نام رس بیو یہہ۔ نام کا لطف اُٹھاتے ہیں۔ امیر بھیئے ۔ جاویداں ہوئے ۔ اتم رس۔ روحانی لطفت۔ سہج ۔ سکون۔ سماویہ۔ پاتے ہیں۔ جن۔ خادم۔ سمارے ۔ سنبھالتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کروڑوں ہی ہیں خادم خدا کے ۔ روح ان کی نورانی ہوجاتی ہے ۔ کروڑوں س ہی حقیقت کو سمجھنے والے ہیں جو آنکھوں سے دیار الہٰی پاتے ہیں۔ کروڑوں ہی انسان نام خدا کے کا لطف اُٹھاتے ہیں۔ جاویداں ہوجاتے ہیں اور تناسخ سے نجات پاتے ہیں۔ کروڑوں ہی توصف الہٰی کرتے ہیں روحانی لطف اور روحانی سکون وہ پاتے ہیں۔ خدا اپنے خادموں کی ہر وقت سنبھال نگرانی کرتا ہے ۔ اے نانک۔ ایسے انسان خدا کے پیارے ہیں۔

سلوکُ ॥
کرنھ کارنھ پ٘ربھُ ایکُ ہےَ دوُسر ناہیِ کوءِ ॥
نانک تِسُ بلِہارنھےَ جلِ تھلِ مہیِئلِ سوءِ ॥੧॥
لفظی معنی:
کرن۔ کرنا۔ کارن ۔ سبب۔ دوسر ۔ دوسرا۔ دیگر۔ بلہارنے ۔ صدقے ۔ قربانے ۔ جل۔ سمندر۔ پانی۔ تھل۔ زمین۔ مہئل ۔ زمین اور آسمان کے درمیان ۔ خلا۔
ترجمہ معہ تشریح:
دنیا بنانے والا خود خدا اور دنیا دونوں ایک دوسرا نہیں کوئی کرنا اور سبب دونوں ہیں واحد خدا کے دیگر نہیں کوئی نانک ہے قربان اس پر جو زمین آسمان اور پانی میں ہے ۔

اسٹپدیِ ॥
کرن کراۄن کرنےَ جوگُ ॥
جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ ہوگُ ॥
کھِن مہِ تھاپِ اُتھاپنہارا ॥
انّتُ نہیِ کِچھُ پاراۄارا ॥
ہُکمے دھارِ ادھر رہاۄےَ ॥
ہُکمے اُپجےَ ہُکمِ سماۄےَ ॥
ہُکمے اوُچ نیِچ بِئُہار ॥
ہُکمے انِک رنّگ پرکار ॥
کرِ کرِ دیکھےَ اپنیِ ۄڈِیائیِ ॥
نانک سبھ مہِ رہِیا سمائیِ ॥੧॥
لفظی معنی:
جوگ۔ لائق۔ با توفیق ۔ ہوگ۔ ہوگا۔ تھاپ۔ پیدا کرکے ۔ اتھا پہارا۔ مٹانے والا۔ پار ا وار ۔ کنارا۔ دھار۔ آدھار۔ آسرا۔ ادھر۔ بے آسرا۔ اپجے ۔ پیدا ہوتا ہے ۔ سماوے ۔ جذب ہوجاتا ہے ۔ رہاوے ۔ رکھتا ہے ۔ انک ۔ بیشمار۔ رنگ۔ خوشیاں۔ پرکار۔ قسموں کی ۔ وڈیائی۔ عظمت۔ بزرگی۔ سب میہہ رہیا سمائی ۔ سب میں مجذوب ہے بستا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کرنے او رکرانے لائق ہے آپ خدا جو کچھ چاہتا ہے وہ ویسا ہی ہوتا ہے ۔ وہ لا محدود ہے ۔ پل میں پیدا کرکے پل میں مٹا دیتا ہے ۔ لا محدود ہے طاقت اس کی طاقت بے کناراہے ۔ اسکا حکم سہارا سب کا بٹا آسرا وہ رکھتا ہے ۔ حکم سے اس کے ہوتا ہے پیدا حکم میں ہی مجذوب ہوجاتاہے ۔ کوئی اونچا کوئی نیچا یہ اسکا برتارا ہے ۔ اس کے زیر فرمان ہیں لاکہوں خوشیاں کھیل تماشے اور کھیڑے ہیں۔ اپنی عظمت کو خود ہی دیکھتا ہے ۔ نانک سب میں مجذوب وہ ر ہتا ہے ۔

پ٘ربھ بھاۄےَ مانُکھ گتِ پاۄےَ ॥
پ٘ربھ بھاۄےَ تا پاتھر تراۄےَ ॥
پ٘ربھ بھاۄےَ بِنُ ساس تے راکھےَ ॥
پ٘ربھ بھاۄےَ تا ہرِ گُنھ بھاکھےَ ॥
پ٘ربھ بھاۄےَ تا پتِت اُدھارےَ ॥
آپِ کرےَ آپن بیِچارےَ ॥
دُہا سِرِیا کا آپِ سُیامیِ ॥
کھیلےَ بِگسےَ انّترجامیِ ॥
جو بھاۄےَ سو کار کراۄےَ ॥
نانک د٘رِسٹیِ اۄرُ ن آۄےَ ॥੨॥
لفظی معنی:
گت ۔ روحانی طور پر بلند اخلاق۔ ہرگن۔ الہٰی اوصاف۔ بھاکھے ۔ بیان کرتا ہے ۔ بد اخلاق ۔ گمراہ ۔ منکر۔ آپن ویچارے ۔ اپنے خیالات اور سوچ سمجھ کے مطابق ہر دو ہاں بریان۔ ہر دوعالموں ۔ بہشت و دوزخ ۔ سوآمی ۔ آقا۔ مالک۔ دگسے ۔ خوش ہوتا ہے ۔ انتر جامی ۔ اندرونی راز جاننے والا۔ بھاوے ۔ چاہتا ہے ۔ درشٹی ۔ زیر نظر ۔ نگاہ ۔ اور ۔ دوسرا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اگر منظور خدا کو ہو تو بلند روحانی حالت عنایت کرتا ہے ۔ اگر منظور خدا کو ہو تو پتھر جیسے دل ہوں جن کے ان کو بھی کا میاب بنا تا ہے ۔ اگر منظور خود کو ہو مرودے کو سانس دلاتا ہے ۔ چاہے خدا اگر تو حمدو اپنی کرواتا ہے ۔ چاہے خدا اگر تو بداخلاق کو پاک بناتا ہے ۔ خود ہی پیدا کرکے عالم خدا خود ہی اس پر سوچ بناتا ہے ۔ دونوں عالموں زیر فرمان ہیں اس کے وہ دونوں مالک ہے ۔ خود ہی کھیلے کھیل کھلائیے خو دہی خوش وہ ہوتا ہے ۔ جو خواہش ہے اس کی وہی کار کراتا ہے ۔ اے نانک ۔ اسکا ثانی اور نظر نہ آتا ہے ۔

کہُ مانُکھ تے کِیا ہوءِ آۄےَ ॥
جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ کراۄےَ ॥
اِس کےَ ہاتھِ ہوءِ تا سبھُ کِچھُ لےءِ ॥
جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ کرےءِ ॥
انجانت بِکھِیا مہِ رچےَ ॥
جے جانت آپن آپ بچےَ ॥
بھرمے بھوُلا دہ دِسِ دھاۄےَ ॥
نِمکھ ماہِ چارِ کُنّٹ پھِرِ آۄےَ ॥
کرِ کِرپا جِسُ اپنیِ بھگتِ دےءِ ॥
نانک تے جن نامِ مِلےءِ ॥੩॥
لفظی معنی:
مانکہ ۔ انسان ۔ انجانت ۔ لا علمی ۔ وکھیا۔ بدیاں۔ برائیاں۔ جانت۔ سمجھے ہوئے ۔ بھرمے بھولا ۔ وہم وگمان میں گمراہ۔ دہدس ۔ ہر طرف۔ دھاوے ۔ دوڑ دہوپ ۔ بھٹکن۔ نمکہہ۔ آنکھ جھپکنے کے وقت میں۔ چارکنٹ ۔ چاروں طرف ۔ بھگت۔ عابد۔ خادم۔ رضا کار الہٰی۔
ترجمہ معہ تشریح:
بتاؤ انسان کر سکتا ہے کیا۔ اسمیں کونسی طاقت ہے جو چاہتا ہے آقا وہی کار کراتا ہے ۔ اگر ہوا س میں طاقت تو سب کچھ لے لے وہ جو کچھ چاہتا ہے وہی کار وہ کرتا ہے ۔ لا علمی کے کارن بدیوں اور برائیوں میں پھنس جاتا ہے ۔ سوبھ ہوا گر اسے تو گناہوں سے کیوں نہ بچ جائے وہ ۔ وہم وگمان میں بھٹکتا انسان دوڑ دہوپ کرتا ہے وہ ۔ چاروں طرف بھٹکتی روح اس کی پل میں واپس آتی ہے ۔ جسے خدا رحمت سے اپنی خادم و عابد بناتا ہے ۔ وہ اے نانک۔ وہ نام الہٰی عبادت الہٰی پاتا ہے ۔

کھِن مہِ نیِچ کیِٹ کءُ راج ॥
پارب٘رہم گریِب نِۄاج ॥
جا کا د٘رِسٹِ کچھوُ ن آۄےَ ॥
تِسُ تتکال دہ دِس پ٘رگٹاۄےَ ॥
جا کءُ اپُنیِ کرےَ بکھسیِس ॥
تا کا لیکھا ن گنےَ جگدیِس ॥
جیِءُ پِنّڈُ سبھ تِس کیِ راسِ ॥
گھٹِ گھٹِ پوُرن ب٘رہم پ٘رگاس ॥
اپنیِ بنھت آپِ بنائیِ ॥
نانک جیِۄےَ دیکھِ بڈائیِ ॥੪॥
لفظی معنی:
کھن میہہ ۔ پل مینہہ ۔ نیچ ۔ کمینہ ۔ کیٹ ۔ کیڑا۔ پار برہم۔ پار لگانے والا۔ غریب نواز۔ غریب پرور۔ غریب پر مہربان۔ درشٹ ۔ نگاہ ۔ شتکال ۔ فورا ً ۔ وہ دس۔ ہر طرف۔ پرغاوے ۔ شہور ۔ شہرت یافتہ ۔ بخشش۔ مہرباین ۔ کرم و عنایت ۔ جگدیس ۔ عالم کا مالک ۔ جیو۔ روح۔ جان ۔ پنڈ۔ جسم۔ راس۔ پونجی ۔ سرمایہ ۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں ۔ برہم ۔ خدا۔ پر گاس۔ نور ۔ روشی ۔ بنت ۔ منصوبہ ۔ وڈائی ۔ عظمت۔
ترجمہ معہ تشریح:
پل میں جو ہو عاجز کپڑے کی مانند اسے حکمران بناتا ہے ۔ غریب پرور غریبوں کا ہمدرد خدا ، غریبوں کی پرورش کرتا ہے ۔ جو کسی کی نظروں میں نہ ہو فورا ً ( اسے ) اس کی ہر طرف شہرت پھیلاتا ہے ۔ جس پر ہو الہٰی رحمت اس کے اعمال کا حساب نہیں لیتا خدا۔ دل وجان اسکا سرمای ہ ہے ہر دل میں وہ سمائیا ہے اپنا منصوبہ خود ہی بنا کر نانک خوش ہوتا ہے ۔ خود ہی اپنی عظمت سے ۔

اِس کا بلُ ناہیِ اِسُ ہاتھ ॥
کرن کراۄن سرب کو ناتھ ॥
آگِیاکاریِ بپُرا جیِءُ ॥
جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ پھُنِ تھیِءُ ॥
کبہوُ اوُچ نیِچ مہِ بسےَ ॥
کبہوُ سوگ ہرکھ رنّگِ ہسےَ ॥
کبہوُ نِنّد چِنّد بِئُہار ॥
کبہوُ اوُبھ اکاس پئِیال ॥
کبہوُ بیتا ب٘رہم بیِچار ॥
نانک آپِ مِلاۄنھہار ॥੫॥
لفظی معنی: ترجمہ معہ تشریح:
انسان کی اپنی طاقت اس کے ہاتھ نہیں ہے ۔ کرنے او ر کرانے والا ہے سب کا مالک ہے ۔ یہ انسان کبھی بلندی و عظمت پاتا ہے کبھی پستی اور کیمنگی پاتا ہے ۔ گاہے افسو ہے کرتا کبھی خوشی مناتا ہے کبھی بدگوئی کی ہے عادت کبھی بلندی ہے کسی پستی کبھی الہٰی باتوں کو سمجھنے والا ہے ۔ اے نانک کبھی جو خودا سب کو ساتھ ملانے والا ہے ۔

کبہوُ نِرتِ کرےَ بہُ بھاتِ ॥
کبہوُ سوءِ رہےَ دِنُ راتِ ॥
کبہوُ مہا ک٘رودھ بِکرال ॥
کبہوُنّ سرب کیِ ہوت رۄال ॥
کبہوُ ہوءِ بہےَ بڈ راجا ॥
کبہُ بھیکھاریِ نیِچ کا ساجا ॥
کبہوُ اپکیِرتِ مہِ آۄےَ ॥
کبہوُ بھلا بھلا کہاۄےَ ॥
جِءُ پ٘ربھُ راکھےَ تِۄ ہیِ رہےَ ॥
گُر پ٘رسادِ نانک سچُ کہےَ ॥੬॥
لفظی معنی:
نرت۔ ناچ۔ بھانت۔ قسموں کا ۔ مہاں کرودھ ۔ بھاری غصہ ۔ وکرال ۔ خوفناک۔ ڈراؤنا۔ سرب سارے ۔ ہوت ۔ روا۔ دہول ہوجاتا ہے ۔ وڈراجا ۔ بھری حکمران۔ بھیکھاری ۔ بھیکھ مانگنے والا۔ نیچ ۔ کمینہ ۔ ساجا۔ ساجا ۔ بھیس۔ اپ کیرت بد نامی ۔ بھلا بھلا ۔ نیک ۔ جیو پربھ رراکہے ۔ جیسے خدا بچائے ۔ تو ہی ۔ ویسے ہی سچ کہے ۔ حقیقت بیان کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کبھی کئی قسموں ے ناچ ناچنتا ہے کبھی روز و شب سویا رہتا ہے ۔ غسے میں اور طیش میں آتا ہے کبھی ۔ کبھی سب کے پاؤں کی دہول ہوجاتا ہے ۔ بھاری حکمران ہوجاتا ہے کبھی ۔ کبھی بھکاری کا بھیس بناتاہے اور کبھی بدنامی پاتا ہے ۔ کبھی نیک ہوکر نیک سیرت کہلاتا ہے ۔ جیسا خدا اسے رکھتا ہے ویسا ہی وہ رہتا ہے ۔ رحمت ممرشد سے نانک سچی سچی کہتا ہے ۔

کبہوُ ہوءِ پنّڈِتُ کرے بکھ٘ز٘زانُ ॥
کبہوُ مونِدھاریِ لاۄےَ دھِیانُ ॥
کبہوُ تٹ تیِرتھ اِسنان ॥
کبہوُ سِدھ سادھِک مُکھِ گِیان ॥
کبہوُ کیِٹ ہستِ پتنّگ ہوءِ جیِیا ॥
انِک جونِ بھرمےَ بھرمیِیا ॥
نانا روُپ جِءُ س٘ۄاگیِ دِکھاۄےَ ॥
جِءُ پ٘ربھ بھاۄےَ تِۄےَ نچاۄےَ ॥
جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ ہوءِ ॥
نانک دوُجا اۄرُ ن کوءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
لفظی معنی در ج نہیں ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کبھی ہوکر پنڈت واعظ کرتا ہے ۔ کبھی خاموش ہوکر ۔ چپکے دھیان لگاتا ہے ۔ کبھی زیارت گاہوں کی زیارت سے خود کو پاک بناتا ہے ۔ کبھی پاکدامن ہوکر پاکدامنی کے لئے راغب ہوکر زبان سے علم کی بابت بتلاتا ہے ۔ کبھی کیڑا کبھی ہاتھی کبھی پتنگے کی زندگی جیتا ہے ۔ اور طرح طرح کی زندگیوں میں بھٹکتا رہتا ہے ۔ بھہر دپیئے کی مانند طرح طرح کے بھیس دکھاتا ہے ۔ جیسے ہے رضا خدا کی ویسے ناچ نچاتا ہے ۔ جو چاہتا ہے وہ ہوتا ہے ۔ اس کے بغیر نہیں کوئی دوسرا بات یہ نانک کہتا ہے ۔

کبہوُ سادھسنّگتِ اِہُ پاۄےَ ॥
اُسُ استھان تے بہُرِ ن آۄےَ ॥
انّترِ ہوءِ گِیان پرگاسُ ॥
اُسُ استھان کا نہیِ بِناسُ ॥
من تن نامِ رتے اِک رنّگِ ॥
سدا بسہِ پارب٘رہم کےَ سنّگِ ॥
جِءُ جل مہِ جلُ آءِ کھٹانا ॥
تِءُ جوتیِ سنّگِ جوتِ سمانا ॥
مِٹِ گۓ گۄن پاۓ بِس٘رام ॥
نانک پ٘ربھ کےَ سد کُربان ॥੮॥੧੧॥
لفظی معنی:
سادھ سنگت۔ صحبت و قرقبت پاکدامناں۔ استھان ۔ مقام ۔ ٹھکانہ ۔ پر گاس۔ روشن ۔ علم کی روشنی ۔ وناس۔ لافناہ ۔ من تن ۔ دل وجان۔ رتے ۔ محو۔ اک رنگ ۔ وحدت کی پیار میں۔ پار برہم کے سنگ۔ خدا کے ساتھ ۔ کھٹانا۔ ملجاتا ہے ۔ تیؤ۔ ایسے ہی ۔ جوتی ۔ نور۔ سنگ۔ ساتھ ۔ جوت سمانا۔ نور میں نور مل جاتا ہے ۔ گون ۔بھٹکنا ۔ وسرام۔ سکون۔ سد۔ سدا۔ ہمیشہ ۔ قربان۔ صدقے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کبھی صحبت و قربت پاکدمناں پاتاہے انسان ۔ اس مقام سے کبھی واپس نہیں آتا۔ انسان اسکا دل جب گیان سے پر نور ہوجاتا ہے ۔ وہ مقام لافناہ ہوجاتا ہے ۔ دل وجان الہٰی نام میں محو ہوجاتے ہیں۔ الہٰی پیار میں مسرور ہوجاتے ہیں ۔ ذات الہٰی کا وصل پاکر۔ ساتھ الہٰی ہوجاتا ہے ۔ جیسے پانی سے پانی مل کر پہلی پہچان گنوا دیتا ہے ۔ ایسے تنور انسانی نور الہٰی سے مل کر پہچان گنوا دیتا ہے ۔ بھٹکن مٹ جاتی ہے ۔ سکون روحانی پاتا ہے ۔ نانک۔ پاک خدا صد بار صدقے جاتا ہے ۔

سلوکُ ॥
سُکھیِ بسےَ مسکیِنیِیا آپُ نِۄارِ تلے ॥
بڈے بڈے اہنّکاریِیا نانک گربِ گلے ॥੧॥
لفظی معنی:
مسکینیا ۔ عاجز۔ غریبانہ عادات کا مالک ۔ آپا۔ کوئشتا۔ خوئش ۔ نورا۔ ترک کرکے ۔ اہنکاریا۔ تکبر کرنے والے ۔ مغرور۔ گربھ ۔تکبر ۔ غرور۔ گلے ۔ مٹ گئے (1)
ترجمہ معہ تشریح:
خودی مٹا کر جو عاجز کہلاتا ہے ۔ آخر وہ سکہہ پاتا ہے ۔ بھاری ہیں مغرور جو نانک مغروری میں مٹ ۔

اسٹپدیِ ॥
جِس کےَ انّترِ راج ابھِمانُ ॥
سو نرکپاتیِ ہوۄت سُیانُ ॥
جو جانےَ مےَ جوبنۄنّتُ ॥
سو ہوۄت بِسٹا کا جنّتُ ॥
آپس کءُ کرمۄنّتُ کہاۄےَ ॥
جنمِ مرےَ بہُ جونِ بھ٘رماۄےَ ॥
دھن بھوُمِ کا جو کرےَ گُمانُ ॥
سو موُرکھُ انّدھا اگِیانُ ॥
کرِ کِرپا جِس کےَ ہِردےَ گریِبیِ بساۄےَ ॥
نانک ایِہا مُکتُ آگےَ سُکھُ پاۄےَ ॥੧॥
لفظی معنی:
ابھیمان۔ ناز ۔ تکبر۔ نرک پانی ۔ دوزخ کا حقدار ۔ سوآن ۔ کتا۔ جو بن دنت ۔ جوانی پر ناز کرنے والا۔ غرور ۔ دشٹا۔ گندگی ۔ جنت ۔ کیڑا۔ کرم ونت ۔ نیک اعمال ۔ جنم مدے ۔ پیدا ہوتا ہے مرجاتا ہے ۔ تناسخ میں رہتا ہے ۔ گمان۔ غرور۔ ناز۔ بھوم ۔ زمین ۔ مورکہہ ۔ بے تھل۔ اگیان۔ لا علم۔ جاہل۔ ہر وے ۔ دلمیں۔ غریبی ۔ عاجزی ۔ مسکینی ۔ انیہاں ۔ یہاں۔ مکت۔ نجات۔ آزادی۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دل میں غرور حکومت کا ۔ وہ کتے کی مانند دوزخ میں جائیگا ۔ جس کو ناز جوانی پر جوانی پر غرور جو کرتا ہے وہ گندگی کا کیڑا ہوجاتا ہے ۔ جس کو ناز ہے اپنے اعمالوں پر اور خود کو عامل کہتا ہے ۔ اس غرور کی بدولت تناسخ میں وہ رہتا ہے ۔ جس کو ناز ہے دولت اور زمین کا وہ کم عقل ہے او ر جاہل ہے ۔ جس کے دلمیں اپنی رحمت سے خدا مسکینی دیتا ہے ۔ اے نانک اس عالم میں نجات و آزادی اور آئندہ بھی سیکھ پاتا ہے ۔

دھنۄنّتا ہوءِ کرِ گرباۄےَ ॥
ت٘رِنھ سمانِ کچھُ سنّگِ ن جاۄےَ ॥
بہُ لسکر مانُکھ اوُپرِ کرے آس ॥
پل بھیِترِ تا کا ہوءِ بِناس ॥
سبھ تے آپ جانےَ بلۄنّتُ ॥
کھِن مہِ ہوءِ جاءِ بھسمنّتُ ॥
کِسےَ ن بدےَ آپِ اہنّکاریِ ॥
دھرم راءِ تِسُ کرے کھُیاریِ ॥
گُر پ٘رسادِ جا کا مِٹےَ ابھِمانُ ॥
سو جنُ نانک درگہ پرۄانُ ॥੨॥
لفظی معنی:
دھنونتا۔ دولتمند۔ سرمایہ دار۔ گر بھارے ۔ غرور کرتا ہے ۔ ترن تنکا۔ سمان۔ برابر ۔سنگ ۔ ساتھ ۔ لشکر ۔ فوج۔ مانکھ ۔ انسان۔ آس ۔ اُمید ۔ پل بھیتر ۔ پل بھر میں۔ وناسا۔ فناہ ۔ بلونت ۔ طاقتور۔ کھن مینہہ۔ پل بھر میں۔ ھنمت ۔ خاک ۔ میں ملجاتا ہے ۔ بدلے ۔ پرواہ نہیں کرتا ۔ اہنکا دی ۔ مقرور ۔ دھرم رائے ۔ الہٰی منصف۔ فرشتہ انصاف ۔ خواری۔ ذلیل ۔ ابھیمان۔ تکبر۔ درگیہہ۔ الہٰی دربار ۔ پروان۔ قبول ۔ منظور
ترجمہ معہ تشریح:
جو سرمایہ دار ہوکر سرمایہ کی کرتا ہے مضر دری ۔ تنکے برابرکوئی چیز نہیں جاتی ساتھ اس ۔ پوری ۔ جو فوجووں اور لشکر کی بہتات پر امیدیں باندھتا ہے ۔ پل بھر میں وہ فناہ و تباہ ہوجاتی ہے ۔ جو خود کو طاقتور سمجھ کر طاقت پر اتراتا ہے ۔ پہل بھر میں وہ خاک میں ملجاتا ہے ۔ جو پرواہ نہیں کرتا کسی کی تکبر کرتا ہے منصف الہٰی اسے ذلیل وخووار کرتا ہے ۔ رحمت مرشد سے جسکا غرور مٹ جائے ۔ ایسا انسان اے نانک بارگاہ الہٰی قبولیت پاتا ہے ۔

کوٹِ کرم کرےَ ہءُ دھارے ॥
س٘رمُ پاۄےَ سگلے بِرتھارے ॥
انِک تپسِیا کرے اہنّکار ॥
نرک سُرگ پھِرِ پھِرِ اۄتار ॥
انِک جتن کرِ آتم نہیِ د٘رۄےَ ॥
ہرِ درگہ کہُ کیَسے گۄےَ ॥
آپس کءُ جو بھلا کہاۄےَ ॥
تِسہِ بھلائیِ نِکٹِ ن آۄےَ ॥
سرب کیِ رین جا کا منُ ہوءِ ॥
کہُ نانک تا کیِ نِرمل سوءِ ॥੩॥
لفظی معنی:
کرم۔ اعمال ۔ ہوء۔ خودی ۔ سرم۔ محنت و مشقت۔ ماند۔ برتھارے ۔ بیکار۔ بیفائدہ۔ تپسیا۔ عبادت۔ نرک۔ دوزخ۔ سورگ۔ جنت۔ بہشت۔ اوتار۔ پیدا ہوتا ہے ۔ انک جتن۔ بیشمار کوشش۔ آتم۔ روح۔ نہیں دروے ۔ نرم نہیں ہوتی ۔ گوے ۔ جائیگا۔ بھلا ۔ نیک۔ بھلائی ۔ نیکی ۔ نکٹ۔ نزدیک۔ رین۔ دہول۔ من۔ دل۔ نرمل سوئے ۔ پاک شہرت ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اگر کوئی نیکی کے کروڑوں اعمال کیوں نہ کرتا ہو مگر اگر دل میں خودی ہے تو ساری محنت و مشقت بیکار ہے ۔ خواہ بیشمار عبادت اور ریاضت کرتے ہو مگر دل میں غرور ہے ۔ تو کبھی دوزخ اور کبھی بہشت میں بھٹکتے رہو گے ۔ بیشمار کوشش و کواش کرنے کے با ووجود اگر دل نرم نہیں ہوتا تو الہٰی درگاہ میں کیسے رسائی حاصل ہوگی ۔ جو دلمیں خود کو نیک کہلاتا ہے ۔ مگر نیکی اس کے نزدیک نہیں پھٹکتی ۔ جو اپنے آپ کو سب کے پاؤں کی دہول سمجھتا ہے ۔ اور ہوتا ہے اے نانک بتادے وہ نیک شہرت پاتا ہے ۔

جب لگُ جانےَ مُجھ تے کچھُ ہوءِ ॥
تب اِس کءُ سُکھُ ناہیِ کوءِ ॥
جب اِہ جانےَ مےَ کِچھُ کرتا ॥
تب لگُ گربھ جونِ مہِ پھِرتا ॥
جب دھارےَ کوئوُ بیَریِ میِتُ ॥
تب لگُ نِہچلُ ناہیِ چیِتُ ॥
جب لگُ موہ مگن سنّگِ ماءِ ॥
تب لگُ دھرمُ راءِ دےءِ سجاءِ ॥
پ٘ربھ کِرپا تے بنّدھن توُٹےَ ॥
گُر پ٘رسادِ نانک ہءُ چھوُٹےَ ॥੪॥
لفظی معنی:
جب تگ۔ جب تک ۔ تب۔ اسوقت تک ۔ دھارے ۔ دلمیں سوچتا ہے ۔ دہری ۔ دشمن۔ میت۔ دوست۔ نہچل۔ مستقل۔ چیت ۔ دل ۔ موہ مگن سنگ مائے ۔ جب تک انسان دولت کی محبت میں مست ہے ۔ دھرم رائے ۔ الہٰی منصف۔ انسانیت کا منصف۔ سزائے ۔ ساز۔ا بندھن۔ بندھش ۔ غلامی۔ گر پرساد۔ رحمت مرشد سے ۔ ہوء ۔ خودی
ترجمہ معہ تشریح:
جب تک انسان سمجھتا ہے کہ میں ہی سب کچھ کرنے والا ہوں ۔ تب تک اسے سکھ نہیں چین نہیں آرام نہ ملتا ہے ۔ جب انسان یہ سمجھتا ہے کہ میں کر رہا ہوں تو انسان الہٰی جدائی کی وجہ سے بھٹکن اور دوڑ دہوپ میں رہتا ہے ۔ جب تک انسان کسی کو دوست کسی کو دشمن سمجھتا ہے ۔ تب تک اس کے من اور سوچ میں مستقل مزاجی نہیں رہتی ۔ جب تک انسان محبت میں سر شار رہتا ہے ۔ تب تک الہٰی منصف انصاف انسان کو سزا دیتا رہتا ہے ۔ الہٰی کرم و عنایت اور رحمت سے انسان کی غلامی کتم ہوتی ہے ۔ اور انسان کی خودی رحمت مرشد سے مٹتی ہے اے نانک۔

سہس کھٹے لکھ کءُ اُٹھِ دھاۄےَ ॥
ت٘رِپتِ ن آۄےَ مائِیا پاچھےَ پاۄےَ ॥
انِک بھوگ بِکھِیا کے کرےَ ॥
نہ ت٘رِپتاۄےَ کھپِ کھپِ مرےَ ॥
بِنا سنّتوکھ نہیِ کوئوُ راجےَ ॥
سُپن منورتھ ب٘رِتھے سبھ کاجےَ ॥
نام رنّگِ سرب سُکھُ ہوءِ ॥
بڈبھاگیِ کِسےَ پراپتِ ہوءِ ॥
کرن کراۄن آپے آپِ ॥
سدا سدا نانک ہرِ جاپِ ॥੫॥
لفظی معنی:
سہس۔ ہزاروں۔ دھاروے ۔ دوڑتا ہے ۔ ترپت ۔ پیاس نہیں بجھتی ۔ خواہش پوری نہیں ہوتی ۔ پاچھے پاوے ۔ جمع کرتا ہے ۔ وکھیا۔ زہر۔ دنیاوی دولت۔ کھپ کھپ ۔ سخت محنت کرتا ہے ۔ عذاب اُٹھاتا ہے سنتوکھ ۔ صبر۔ سپن۔ خواب ۔ منورتھ ۔ مطلب۔ مقصد۔ مانند۔ برتھے ۔ بیکار۔ بیفائدہ ۔ کابے ۔ کام ۔ نام ۔ سچ ۔ رنگ۔ پری م پیار۔ سرب سکھ ۔ سارے آرام ۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت۔ کرن کراؤن ۔ کرنے اور کرانے والا۔ ہر جاپ ۔ خدا کو یاد کر۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہزاروں کمانے کے بعد لاکھوں کے لئے دوڑنا ہے ۔ پیاس نہیں بجھتی خؤاہش پوری نہیں ہوتی دولت کے پیچھے بھاگتا ہے اور جمع کرتا ہے ۔ بغیر صبر کسی کی خواہش پوری نہیں ہوتی ۔ جیسے خواب میں سارے کام بیکار ہوتے ہیں ۔ انسان دنیاوی دولت بہت عیش و آرام کرتا ہے ۔ مگر تسلی نہیں ہوتی و ڈر دہوپ کرتا ہے ۔ عذاب پاتاہے ۔ الہٰی نام با سچ کے پیار اور پریم سے سارے سکھ ملتے ہیں۔ سب کچھ کرنے کروانے والا ہے خود خدا۔ اے نانک ہمیشہ اسے یاد کر ۔

کرن کراۄن کرنیَہارُ ॥
اِس کےَ ہاتھِ کہا بیِچارُ ॥
جیَسیِ د٘رِسٹِ کرے تیَسا ہوءِ ॥
آپے آپِ آپِ پ٘ربھُ سوءِ ॥
جو کِچھُ کیِنو سُ اپنےَ رنّگِ ॥
سبھ تے دوُرِ سبھہوُ کےَ سنّگِ ॥
بوُجھےَ دیکھےَ کرےَ بِبیک ॥
آپہِ ایک آپہِ انیک ॥
مرےَ ن بِنسےَ آۄےَ ن جاءِ ॥
نانک سد ہیِ رہِیا سماءِ ॥੬॥
لفظی معنی:
کرنیہار۔ کرنے کے لئاق۔ کہا۔ کہاں۔ ویچار۔ سمجھ۔ درشٹ ۔ نظریہ۔ تیسا۔ ویسا۔ اپنے رنگ۔ اپنی منشاکے مطابق۔ سنگ۔ ساتھ۔ بوجہے ۔ سمجھے ۔ بیبک ۔ وچار کرتا ہے ۔ خیال دوڑاتا ہے ۔ پہچان کرتا ہے ۔ آپیہہ ایک۔ خود ہی واحد۔ آپیہہ انیک۔ بیشمار ۔ نہ پیدا ہوتا ہے نہ فناہ ہوتا ہے ۔ سدہی ۔ ہمیشہ ۔ رہیا سمائے ۔ اپنے اندر بستا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہر کام کو کرنے اور کرانے والا ہے آپ کرتار انسان میں کہاں ہے توفیق دیکھو گر ویچار ۔ جسیی ہے نظر عنایت خدا کی ویسا انسان ہوجاتا ہے ۔ خود ہی از خود وہ خود ہی وہ خدا ہے ۔ جو کچھ ہے وہ کرتا پاپنی موج و منشا سے ہے کرتا۔ سب سے دور وہ سب کے حضور وہ سمجھتا ہے نظر کرتا ہے تحقیق خود ہی کرتا ہے ۔ وحدت میں ذات ہے ۔ اس کی کثرت میں بھی آپ ہی ہے ۔ موت نہ اسے مٹاتی ہے نہ ہوتا ہے پیدا امتر اجر اکال ہے ۔ اے نانک اس کی ذات ہے ایک سی سب میں نور اسی کا ہے ۔

آپِ اُپدیسےَ سمجھےَ آپِ ॥
آپے رچِیا سبھ کےَ ساتھِ ॥
آپِ کیِنو آپن بِستھارُ ॥
سبھُ کچھُ اُس کا اوہُ کرنیَہارُ ॥
اُس تے بھِنّن کہہُ کِچھُ ہوءِ ॥
تھان تھننّترِ ایکےَ سوءِ ॥
اپُنے چلِت آپِ کرنھیَہار ॥
کئُتک کرےَ رنّگ آپار ॥
من مہِ آپِ من اپُنے ماہِ ॥
نانک کیِمتِ کہنُ ن جاءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
رچیا۔ بسیا۔ ملیا ۔ دستھار۔ پھیلاؤ ۔ ۔ کر نیہار۔ کرنے کے لئاق۔ کار ساز۔ کرتار۔ بھن۔ علیحدہ۔ تھان تھننتر ۔ ہر جا۔ ایکو سوئے ۔ وہی واحد ہے ۔ چلت ۔ کار ۔ وہار۔ کار کردگی ۔ کوتک ۔ ککھی۔ تماشے ۔ رنگ۔ پریم ۔ پیار۔ اپار۔ لا محدود۔ قیمت ۔ مول
ترجمہ معہ تشریح:
خدا خود ہی کرتا ہے ۔ واعظ خود ہی اسے سمجھتا ہے ۔ سب عالم کو پیدا کرکے سب میں وہ خود بستا ہے اپنے سے خود آپ بنا کر اپنا آپ پھیلائیا ہے ۔ ہر شے کا وہ ہے قادر اسی نے عالم بنائیا ہے ۔ کہو اگر اس سے باہر کسی نے کچھ کیا ہے اور ہوا ہے ہر جا اسی کا نور ظہور ہوا ہے ۔ اپنا کھیل آپ ہی کرنے لائق ہے کھیل ن ہیں سب براے اسکے اور پیار پیارے ہیں۔ ہر دلمیں وہ خود بستا ہے اور اس کے من میں سب کا تصور ہے ۔ اے نانک۔ بے مول ہے ذات اس کی تو قیمت کون بتائے اس کی ۔

ستِ ستِ ستِ پ٘ربھُ سُیامیِ ॥
گُر پرسادِ کِنےَ ۄکھِیانیِ ॥
سچُ سچُ سچُ سبھُ کیِنا ॥
کوٹِ مدھے کِنےَ بِرلےَ چیِنا ॥
بھلا بھلا بھلا تیرا روُپ ॥
اتِ سُنّدر اپار انوُپ ॥
نِرمل نِرمل نِرمل تیریِ بانھیِ ॥
گھٹِ گھٹِ سُنیِ س٘رۄن بکھ٘ز٘زانھیِ ॥
پۄِت٘ر پۄِت٘ر پۄِت٘ر پُنیِت ॥
نامُ جپےَ نانک منِ پ٘ریِتِ ॥੮॥੧੨॥
لفظی معنی:
ست۔ سچ۔ دائمی سچ ۔ پربھ۔ خدا۔ واہگورو۔ اللہ تعالیٰ ۔ گرپر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔ کنے ۔ کسی نے ۔و کھیانی ۔ بتائیا ہے ۔ تشریح کی ہے ۔ کنا۔ کرتا ہے ۔ کوٹ مدھے ۔ کروڑوں میں سے ۔ چینا۔ پہچان کی ہے ۔ روپ ۔ شکل ۔ انوپ ۔ نرالی ۔ انوکھی ۔ نرمل ۔ پاک ۔ بانی ۔ بول۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دل نے ۔ سرون سنی ۔ کانوں سے سنی ۔ وکھانی ۔ بتائی ۔ من پریت ۔ دلی ۔ پیار سے ۔ پوتر۔ پاک۔ پنیت۔ نہایت پاک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا دائمی سچا اور پاک آقا ہے ۔ مگر رحمت مرشد سے کسی نے ہی اسے ابتائیا ہے ۔ ۔ جو کچھ اس نے کیا ہے وہ سچا پاک دائمی اور مکمل ہے ۔ کروڑوں میں سی نے ہی اسے پہچانا ہے ۔ پیاری پیاری نیک نیک شکل ہے تیری ۔ بے شمار خوبصورت ے مثال لاثانی اور نورانی ہے ۔ پاک نہایت پاک ہے کلام تیرا ہر دلمیں سن سن کر ۔ ہر کان سنانی ہے ۔ اے نانک دل کی گہرائیوں اور پریم سے جو یاد کریگا رب کو پاک نہایت پاک ہوجائیگا

سلوکُ ॥
سنّت سرنِ جو جنُ پرےَ سو جنُ اُدھرنہار ॥
سنّت کیِ نِنّدا نانکا بہُرِ بہُرِ اۄتار ॥੧॥
لفظی معنی:
سرن۔ پناہ ۔ جن۔ انسان ۔ پربے ۔ پڑتا ہے ۔ سوجن۔ اس انسان۔ اودھر نہار۔ بچاؤ کے لائق ۔ سنت۔ خدا رسیدہ عابد۔ نندا۔ بدگوئی ۔ نانکا ۔ اے نانک۔ بہور بہور۔ دوبار دوبارہ پیدا ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو انسان پناہ میں آتا ہے خدا رسیدہ عابد کی اس انسان کا بدکاریوں اور برائیوں سے بچاؤ ہو جاتا ہے ۔ اے نانک جو خدا رسیدہ عابد کی بدگوئی کرتا ہے ۔ بار بار جنم لیتا ہے تناسخ میں پڑا رہتا ہے ۔

اسٹپدیِ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ آرجا گھٹےَ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ جم تے نہیِ چھُٹےَ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ سُکھُ سبھُ جاءِ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ نرک مہِ پاءِ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ متِ ہوءِ ملیِن ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ سوبھا تے ہیِن ॥
سنّت کے ہتے کءُ رکھےَ ن کوءِ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ تھان بھ٘رسٹُ ہوءِ ॥
سنّت ک٘رِپال ک٘رِپا جے کرےَ ॥
نانک سنّتسنّگِ نِنّدکُ بھیِ ترےَ ॥੧॥
لفظی معنی:
یہ حصہ درجہ نہیں ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سنت کی بدگوئی کرنے سے عمر گھٹ جاتی ہے ۔ سنت کی بدگوئی سے فرشتہ موت سے نجات نہیں ملتی ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے آرام و آسائش ختم ہوجاتی ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے عذاب پاتا ہے دکھ سہتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے عقل ناپاک ہوجاتی ہے اور بد نامی ہوتی ہے ۔ جس پر سنت کی لعنت اور ملامت ہو اسے کوئی بچاتا نہیں۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے گھر بار ملعون ہوجائیگا۔ سنت رحمت کے مالک ہوتے ہیں اگر ان کی رحمت ہوجائے ۔ نانک سنت کی صحبت سے بدگو بھی کامیابی پاتے ہیں۔

سنّت کے دوُکھن تے مُکھُ بھۄےَ ॥
سنّتن کےَ دوُکھنِ کاگ جِءُ لۄےَ ॥
سنّتن کےَ دوُکھنِ سرپ جونِ پاءِ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ ت٘رِگد جونِ کِرماءِ ॥
سنّتن کےَ دوُکھنِ ت٘رِسنا مہِ جلےَ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ سبھُ کو چھلےَ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ تیجُ سبھُ جاءِ ॥
سنّت کےَ دوُکھنِ نیِچُ نیِچاءِ ॥
سنّت دوکھیِ کا تھاءُ کو ناہِ ॥
نانک سنّت بھاۄےَ تا اوءِ بھیِ گتِ پاہِ ॥੨॥
لفظی معنی:
دوکھن۔ دوکہی ۔ بد گو۔ سکھ ۔ منہ ۔ بھوے ۔ ٹیڑھا ہوجاتا ہے ۔ کاگ جیو لو ے ۔ کولے کے مانند۔ کائیں کائیں کرتا ہے ۔ سرپ ۔ سانپ ۔ جون۔ زندگی۔ نرگد۔ ٹیڑھی ۔ پیٹ کے بل ۔ چلنے والی ۔ جون۔ زندگی۔ کر ماے ۔ کیڑے ۔ ترشنا ۔ خؤاہشات ۔ چھلے ۔ دہوکا دیتا ہے ۔ت یج ۔ عزت۔ وقار۔ نیچ نیچائے ۔ کمینے سے کمینہ ۔ تھاؤ۔ ٹھکانہ
ترجمہ معہ تشریح:
سنت کی بدگوئی کرنے سے مونہ ٹیڑھا ہوجاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے کائیں کائیں کرتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے سانپ کی سی عادت ہو جاتی ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے پیٹ کے بل چلنے والے کیڑوں جیسا ہو جاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے سے خواہشات میں جلتا ہے ۔ سنت کو برا کہنے والا وقار اپنا کوھ دیتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا ہو کمینوں سے بھی کمینہ ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا نہ کوئی ٹھکانہ پاتا ہے ۔ اے نانک۔ اگر سنت چاہے ۔ وہ بھی نجات پا سکتا ہے ۔

سنّت کا نِنّدکُ مہا اتتائیِ ॥
سنّت کا نِنّدکُ کھِنُ ٹِکنُ ن پائیِ ॥
سنّت کا نِنّدکُ مہا ہتِیارا ॥
سنّت کا نِنّدکُ پرمیسُرِ مارا ॥
سنّت کا نِنّدکُ راج تے ہیِنُ ॥
سنّت کا نِنّدکُ دُکھیِیا ارُ دیِنُ ॥
سنّت کے نِنّدک کءُ سرب روگ ॥
سنّت کے نِنّدک کءُ سدا بِجوگ ॥
سنّت کیِ نِنّدا دوکھ مہِ دوکھُ ॥
نانک سنّت بھاۄےَ تا اُس کا بھیِ ہوءِ موکھُ ॥੩॥
لفظی معنی:
ات تائی ۔ دہشت پسند۔ ٹکن ۔ آرام نہیں پاتا ۔ ہتیارا۔ ظالم۔ پرمیشور مار۔ خدا کی اس پر لعنت ہے ۔ ہین ۔ خالی ۔د ین۔ کنگال ۔ دکھیا۔ عذاب زدہ ۔ سرب روگ تمام۔ بیماریاں ۔ دجوگ ۔ جدائی۔ دوکھ ماہے دوکہ ۔ بھاری عذاب ۔ موکہہ ۔ نجات۔
ترجمہ معہ تشریح:
سنت کا بدگوئی کرنے والا دہشت پسند ہوجاتا ہے اورآرام نہ پاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا ظالم بن جاتا ہے اور الہٰی لعنت زدہ ہوجاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا حکومت سے خالی جاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا عذاب پاتا ہے اور بے زرد ہوجاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا بیمار ہے اور غم زدہ ہوجاتا ہے رنجیدہ ہوجاتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا رب سے دوری پاتا ہے سنت کی بد گوئی کرنا بھاری جرم کمانا ہے ۔ اے نانک۔ اگر سنت چاہے تو وہ بھی غلامی سے نجات پاتا ہے ۔

سنّت کا دوکھیِ سدا اپۄِتُ ॥
سنّت کا دوکھیِ کِسےَ کا نہیِ مِتُ ॥
سنّت کے دوکھیِ کءُ ڈانُ لاگےَ ॥
سنّت کے دوکھیِ کءُ سبھ تِیاگےَ ॥
سنّت کا دوکھیِ مہا اہنّکاریِ ॥
سنّت کا دوکھیِ سدا بِکاریِ ॥
سنّت کا دوکھیِ جنمےَ مرےَ ॥
سنّت کیِ دوُکھنا سُکھ تے ٹرےَ ॥
سنّت کے دوکھیِ کءُ ناہیِ ٹھاءُ ॥
نانک سنّت بھاۄےَ تا لۓ مِلاءِ ॥੪॥
لفظی معنی:
اپوت۔ ناپاک ۔ مت۔ دوست ۔ ڈان۔ سزا۔ تیاگے ۔ چھوڑ دیتے ہیں۔ اہنکاری ۔ گھمنڈی ۔ وکاری ۔ بد چلن۔ لڑئے ۔ دور رہتا ہے ۔ خالی رہتا ہے ۔ ٹھاؤں۔ مقام۔
ترجمہ معہ تشریح:
سنت کی بدگوئی کرنے والا ناپاک ہے وہ بدکار ہے ۔ وہ ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا کہی کا دوست نہیں ہوتا۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا سزا پاتا ہے سنت کی بدگوئی کرنے والے کو سب چھوڑ دیتے ہیں ۔س نت ی بدگوئی کرنے والا مغرور اور بد کار ہوتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا تناسخ میں پڑا رہتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والا آرام سے خالی رہتا ہے ۔ سنت کی بدگوئی کرنے والے کو کوئی سہارا وٹھکانہ نہیں ملتا۔ اے نانک اگر سنت کی خواہش ہو یا چاہے تو بدگوئی کرنے والے کو بھی ساتھ ملا لیتا ہے ۔

سنّت کا دوکھیِ ادھ بیِچ تے ٹوُٹےَ ॥
سنّت کا دوکھیِ کِتےَ کاجِ ن پہوُچےَ ॥
سنّت کے دوکھیِ کءُ اُدِیان بھ٘رمائیِئےَ ॥
سنّت کا دوکھیِ اُجھڑِ پائیِئےَ ॥
سنّت کا دوکھیِ انّتر تے تھوتھا ॥
جِءُ ساس بِنا مِرتک کیِ لوتھا ॥
سنّت کے دوکھیِ کیِ جڑ کِچھُ ناہِ ॥
آپن بیِجِ آپے ہیِ کھاہِ ॥
سنّت کے دوکھیِ کءُ اۄرُ ن راکھنہارُ ॥
نانک سنّت بھاۄےَ تا لۓ اُبارِ ॥੫॥
لفظی معنی:
ادھ بیچ۔ درمیان میں۔ ٹوٹے ۔ ختم ہوجاتا ہے ۔ کتے کاج ۔ کسی کام ۔ بہو پے ۔ پایہ تکمیل۔ مکمل ۔ ادیان ۔ جنگل ۔ بھر مایئے ۔ بھٹکائیں۔ اوجھڑ۔ غلط راستے ۔ تھوتھا ۔ خالی ۔ سمجھ سوچ سے خالی ۔ مرتک کی لوتھا۔ جیسے مردے کی لاش۔ جڑ ۔ بنیاد۔ آپن بیج آپے ہی ۔ کھا ہے ۔ اپنے کئے اعمال کا انجام خود ہی پاتا ہے ۔ راکھنہار۔ بچانے والا۔ لئے اُبھار۔ بچالیتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سنت کی بدنامی کرنے والا کوئی کام پایہ تکمیل تک نہیں پہنچاتا ہر کام درماین میں چھوڑ دیتا ہے ۔ اور کوئی کام مکمل نہیں کرتا۔ سنت کی بدنامی کرنے والا جنگلوں میں بھٹکائیا جائے ۔ اور غلط راستے پر ڈالا جائے ۔ سنت کو بدنام کرنے والا حقیقی زندگی سے بیخبر ہوتا ہے ۔ اس کے دلمیں حقیقی زندگی سمجھ اور سوچنے کے لئے جگہ نہیں ہوتی وہ ایسے ہوتا ہے جیسے ایک مردے کی لاش جو روح کے بغیر ہوتی ہے ۔ سنت کی بدنامی کرنے والے کی زندگی کا مقصد و منزل و بنیاد نہیں ہوتی ۔ وہ اپنے کئے اعمالوں کا نتیجہ اور انجام ن خود ہی برداشت کرتا ہے ۔ سنت کی بدنامی کرنے والے کو کوئی بچا نے والا نہیں ہوتا۔ مگر اے نانک اگر سنت چاہے تو اسے بچا لیتا ہے ۔

سنّت کا دوکھیِ اِءُ بِللاءِ ॥
جِءُ جل بِہوُن مچھُلیِ تڑپھڑاءِ ॥
سنّت کا دوکھیِ بھوُکھا نہیِ راجےَ ॥
جِءُ پاۄکُ ایِدھنِ نہیِ دھ٘راپےَ ॥
سنّت کا دوکھیِ چھُٹےَ اِکیلا ॥
جِءُ بوُیاڑُ تِلُ کھیت ماہِ دُہیلا ॥
سنّت کا دوکھیِ دھرم تے رہت ॥
سنّت کا دوکھیِ سد مِتھِیا کہت ॥
کِرتُ نِنّدک کا دھُرِ ہیِ پئِیا ॥
نانک جو تِسُ بھاۄےَ سوئیِ تھِیا ॥੬॥
لفظی معنی:
یہ حصہ درجہ نہیں ہے

ترجمہ معہ تشریح:
سنت کی بد نامی کرنے والا ایسے چیختا ہے چلاتا ہے جیسے بغیر پانی کے مچھلی ٹڑپھڑاتی ہے ۔ سنت کی بدنامی کرنے والا ہمیشہ بھوک رہتا ہے نہیں کبھی سیر ہوتا وہ ۔ جیسے آغ سیر نہیں ہوتی ایندھن سے ۔ سنت کی بدنامی کرنے والا ہمیشہ اکیلا ہی رہ جاتا ہے ۔ جیسے بلا بیج بیکار تل کا خالی پودا اکیلا رہ جاتا ہے ۔ سنت کی بد نامی کرنے والا فرض شناس نہیں ہوتا۔ سنت کی بد نامی کرنے والا جھوٹ ہمیشہ بولتا ہے سنت کی بدنامی کرنے والے کی یہ کار روز از سے ہے ۔ اے نانک خدا جو چاہتا ہے ہوتا ہے وہی ۔

سنّت کا دوکھیِ بِگڑ روُپُ ہوءِ جاءِ ॥
سنّت کے دوکھیِ کءُ درگہ مِلےَ سجاءِ ॥
سنّت کا دوکھیِ سدا سہکائیِئےَ ॥
سنّت کا دوکھیِ ن مرےَ ن جیِۄائیِئےَ ॥
سنّت کے دوکھیِ کیِ پُجےَ ن آسا ॥
سنّت کا دوکھیِ اُٹھِ چلےَ نِراسا ॥
سنّت کےَ دوکھِ ن ت٘رِسٹےَ کوءِ ॥
جیَسا بھاۄےَ تیَسا کوئیِ ہوءِ ॥
پئِیا کِرتُ ن میٹےَ کوءِ ॥
نانک جانےَ سچا سوءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
بگر روپ ۔ شکل و صورت میں وگاڑ۔ بد شکل درگیہہ۔ عدالت ۔ سہکاییئے ۔ سہکتا ہے ۔ مجبور ی کی حالت۔ نہ مرے نہ جیوائیئے ۔ نہ زندہ نہ مردہ صورت نزاع ۔ پجے نہ آسا۔ امیدیں۔ پوری نہیں ہوتیں۔ نراسا۔ ناا ُمید ۔ تر سٹے ۔ خوف زدہ ۔ بھاوے ۔ جیسا چاہتا ہے ۔ تیسا ۔ ویسا ۔ کرت۔ اعمالات کا پھل ۔ نتیجہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سنت کی بدنامی کرنے والا کی شکل و صورت بگڑ جاتی ہے ۔ اور الہٰی در بار کیجری میں سزا پاتا ہے ۔ کیونکہ اس کو درکار ملتی ہے ۔ سنت کی بدنامی کرنے والے کی نزع کی سی حالت رہتی ہے ۔ نہ وہ جیتا ہے نہ مرتا ہے ۔ سنت کی بدنامی کرنے والے کی کبھی اُمیدیں پوری نہیں ہوتیں۔ اور نا امیدی کی حالت میں اس جہاں سے کوچ کر جاتا ہے ۔ سنت کی بد نامی کرنے والا اس کی کوئی ٹھہراؤ ٹھکانہ نہیں پاتا۔ جیسا خدا چاہتا ہے ویسا ہی ہوجاتا ہے ۔ پہلے کئے اعمال کا تاثر کوئی مٹا نہیں سکتا۔ اے نانک۔ سچا خدا ہی بہتر جانتا ہے ۔

سبھ گھٹ تِس کے اوہُ کرنیَہارُ ॥
سدا سدا تِس کءُ نمسکارُ ॥
پ٘ربھ کیِ اُستتِ کرہُ دِنُ راتِ ॥
تِسہِ دھِیاۄہُ ساسِ گِراسِ ॥
سبھُ کچھُ ۄرتےَ تِس کا کیِیا ॥
جیَسا کرے تیَسا کو تھیِیا ॥
اپنا کھیلُ آپِ کرنیَہارُ ॥
دوُسر کئُنُ کہےَ بیِچارُ ॥
جِس نو ک٘رِپا کرےَ تِسُ آپن نامُ دےءِ ॥
بڈبھاگیِ نانک جن سےءِ ॥੮॥੧੩॥
لفظی معنی:
سب گھٹ ۔ سارے انسانی دل۔ کرنیہار۔ کرنے کے لائق۔ اس میں کرنے کی توفیق ہے ۔ سدا سدا ۔ ہمیشہ ۔ نمسکار ۔ سجدہ ۔ سلام۔ پاؤں چھونا۔ آداب۔ اس نت ۔ تعریف۔ حمدوثناہ ۔ دھیارہو ۔ یاد کرؤ۔ ساس گراس۔ ہر سانس ہر لقمہ ۔ درتے ۔ ہوریہا ہے ۔ جیسا کرنے تیسا تھیا۔ جیسا کسی کو کرتا ہے ویسا وہ ہو جاتا ہے ۔ یہ سارے کھیل خدائی ہیں اس کے اپنے کئے ہوئے ہیں اور خود ہی کرنے کے لائق ہے ۔ دوسرا۔ کون اسے سمجھ سکتا ہے ۔ جس پر خدا مہربان ہوتا ہے ۔ اسے اپنا سچا نام دیتا ہے ۔ اے نانک وہ خوش قسمت ہے ۔

سلوکُ ॥
تجہُ سِیانپ سُرِ جنہُ سِمرہُ ہرِ ہرِ راءِ ॥
ایک آس ہرِ منِ رکھہُ نانک دوُکھُ بھرمُ بھءُ جاءِ ॥੧॥
لفظی معنی:
تجہو ۔ دانشمندی ۔ تجہو ۔ چہوڑو ۔ سر جنہو ۔ نیک انسان ۔ سمرہو ۔ یاد کر ۔ دہرارائے ۔ خدا کو ۔ آس۔ امید۔ دوکہہ ۔ عذاب ۔ بھرم۔ وہم وگمان۔ بھؤ۔ خوف۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے نیک انسانوں دانشمندی چھوڑ کر خدا کو یاد کرؤ۔ اے نانک۔ صرف ایک اُمید دل میں رکھو عذاب ۔ وہم وگمان اور خود ور ہوجائے ۔

اسٹپدیِ ॥
مانُکھ کیِ ٹیک ب٘رِتھیِ سبھ جانُ ॥
دیۄن کءُ ایکےَ بھگۄانُ ॥
جِس کےَ دیِئےَ رہےَ اگھاءِ ॥
بہُرِ ن ت٘رِسنا لاگےَ آءِ ॥
مارےَ راکھےَ ایکو آپِ ॥
مانُکھ کےَ کِچھُ ناہیِ ہاتھِ ॥
تِس کا ہُکمُ بوُجھِ سُکھُ ہوءِ ॥
تِس کا نامُ رکھُ کنّٹھِ پروءِ ॥
سِمرِ سِمرِ سِمرِ پ٘ربھُ سوءِ ॥
نانک بِگھنُ ن لاگےَ کوءِ ॥੧॥
لفظی معنی:
ٹیک ۔ آسرا۔ برتھی ۔ بیکار ۔ بیفائدہ ۔ جان ۔ سمجھ ۔ آگھائے ۔ سیر رہتاہے ۔ بہور ۔ دوبارہ ۔ ترشنا۔ پیاس۔ ہاتھ ۔ طاقت۔ بوجھ ۔ سمجھ کر ۔ رکھ کنٹھ پروئے ۔ ہر وقت یاد رکھ ۔ دگھن۔ رکاوٹ
ترجمہ معہ تشریح:
انسان کا آسرا بیفائدہ ہے اسے بیکار سمجھ ۔ یہ سہارا دینے والا ہے واحد خدا۔ جس کے دینے سےا نسانی من سیر ہوجاتا ہے دوبارہ اسے دنیاوی دولت کی پیاس نہیں رہتی ۔ خدا واحد ہی بچاتا ہے اور خؤد ہی مارتا بھی ہے ۔ انسان کی اس میں کچھ اوقات نہیں۔ الہٰی فرمان سمجھنے سے سکھ ملتاہے ۔ا لہٰی نام کو ہو وقت یاد کرؤ۔ اس خدا کو ہر وقت یاد رکھو اے نانک۔ یاد رکھنے کی برکت سے سفر حیات میں کوئی رکاوٹ نہیں آتی ۔

اُستتِ من مہِ کرِ نِرنّکار ॥
کرِ من میرے ستِ بِئُہار ॥
نِرمل رسنا انّم٘رِتُ پیِءُ ॥
سدا سُہیلا کرِ لیہِ جیِءُ ॥
نیَنہُ پیکھُ ٹھاکُر کا رنّگُ ॥
سادھسنّگِ بِنسےَ سبھ سنّگُ ॥
چرن چلءُ مارگِ گوبِنّد ॥
مِٹہِ پاپ جپیِئےَ ہرِ بِنّد ॥
کر ہرِ کرم س٘رۄنِ ہرِ کتھا ॥
ہرِ درگہ نانک اوُجل متھا ॥੨॥
لفظی معنی:
ستت ۔ تعریف۔ حمدوثناہ ۔ خدا واحد۔ ست ۔سچا ۔ دائمی ۔ وہار۔ برتاؤ۔ کاروبار۔ نرمل۔ پاک۔ صاف۔ رسنا۔ زبان۔ انمرت ۔ آبحیات ۔ زندگی عنایت کرنے والا پانی ۔ سہیلا۔ آسان ۔ جیو۔ زندگی ۔ نینہو۔ آنکھوں سے ۔ ٹھاکر۔ آقا۔ مالک ۔ خدا۔ رنگ ۔ کھیل ۔ تماشے ۔ پیار۔ سادھ سنگ۔ صحبت پاکدامناں۔ سنگ ۔ دوسرے ساتھ ۔ ونسے ۔ مٹ جاتے ہیں۔ پاؤں سے ۔ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی راستے پر چلو ۔ تھوڑے سے وقفہ کے لئے یاد کرنے سے دوش ۔ گناہ مٹ جاتے ہیں۔ ہاتھوں سے کر اعمال تو کانوں سے الہٰی واعظ سن اے نانک الہٰی دربار میں سر خرو ہوجائیگا۔

بڈبھاگیِ تے جن جگ ماہِ ॥
سدا سدا ہرِ کے گُن گاہِ ॥
رام نام جو کرہِ بیِچار ॥
سے دھنۄنّت گنیِ سنّسار ॥
منِ تنِ مُکھِ بولہِ ہرِ مُکھیِ ॥
سدا سدا جانہُ تے سُکھیِ ॥
ایکو ایکُ ایکُ پچھانےَ ॥
اِت اُت کیِ اوہُ سوجھیِ جانےَ ॥
نام سنّگِ جِس کا منُ مانِیا ॥
نانک تِنہِ نِرنّجنُ جانِیا ॥੩॥
لفظی معنی:
وڈبھاگی ۔ بلند قسمت۔ تے جن وہ انسان ۔ جگ ۔ دنیا۔ عالم۔ سدا سدا۔ ہمیشہ ۔ ہر گن ۔ا لہٰی اوصاف۔ ویچار۔ سمجھے ۔ دھنونتے ۔ دولت مند ۔ سنسار ۔ عالم ۔ من تن ۔ دل و زبان سے ۔ بولیہہ ہر ۔ الہٰی صفت صلاح۔ مکہی ۔ مانے وہئے ۔ سر کردہ ۔ ات ات ۔ یہا ں اور وہاں۔ ہر دو عالم ۔ مائیا ۔ با و توک ۔ عقیدت مند ۔ نرنجن ۔ بیداغ ۔ پاک۔ جانیا۔ پہچانیا ۔ سمجھ ہوئی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خوش قسمت ہیں اس عالم میں وہ لوگ ۔ جو ہمیشہ خالق کے گن گاتے ہیں۔ دولتمند وہی ہیں اس علام میں اور سمجھے جاتے ہیں جو نام خدا میں دھیان لگاتے ہیں۔ وہی سر کردہ ہے اس عالم میں جو دل وجان سے حمد خدا کی کرتا ہے ۔ جس نے رب واحد کو پہچانا ہے ۔ اس کو سمجھو سدا سکھی نام الہٰی سچ سے جسکا پیار ہوگیا ہر دو عالم کا اسے پہچان ہوگیا۔ اے نانک۔ اپنے پاک خدا کو پہچان لیا ہے ۔

گُر پ٘رسادِ آپن آپُ سُجھےَ ॥
تِس کیِ جانہُ ت٘رِسنا بُجھےَ ॥
سادھسنّگِ ہرِ ہرِ جسُ کہت ॥
سرب روگ تے اوہُ ہرِ جنُ رہت ॥
اندِنُ کیِرتنُ کیۄل بکھ٘ز٘زانُ ॥
گ٘رِہست مہِ سوئیِ نِربانُ ॥
ایک اوُپرِ جِسُ جن کیِ آسا ॥
تِس کیِ کٹیِئےَ جم کیِ پھاسا ॥
پارب٘رہم کیِ جِسُ منِ بھوُکھ ॥
نانک تِسہِ ن لاگہِ دوُکھ ॥੪॥
لفظی معنی:
گر پر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔ آپن آپ ۔ انسان کو اپنے اعمال اور اندرونی راز۔ بجھے ۔ کا علم ہوتاہے ۔ ترشنا۔ خواہشات کی پیاس۔ بجہے ۔ ختم ہوجاتی ہے ۔ سادھ سنگ۔ صحبت ۔ پاکدامن۔ ہر جس۔ الہٰی صفت صلاح ۔ سرب روگ۔ تمام بیماریوں ۔ ہر جن۔ الہٰی خادم۔ رہت ۔ پاک۔ اندن کیرتن۔ روز و شب الہٰی حمدوثناہ ۔ دکھیان۔ بیان کرنا۔ نربان۔ خواہشات سے پاک۔ ایک اوپر جس کی آس ۔ جسکو واحد خدا سے امید ہے جم کی پھاس ۔ روحانی موت کا پھندہ۔ دوکہہ ۔ عذاب۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کو رحمت مرشد سے اپنے اعمال و راز کی پہچان اور سمجھ اور اندازہ و حساب سمجھ آگیا یہ سمجھ لو کہ اس کی خواہشات کی پیاس ختم ہوگئی۔ صحبت پاکدامن میں الہٰی حمدوثناہ کرنے سے ہر قسم کی بیماریوں سے الہٰی خادم مبرا ہوجاتا ہے ۔روز و شب الہٰی صفت صلاح کرنے سے اور بیان کرنے سے خانہ داری اور قبیلہ داری کرتے ہوئی بھی خواہشات سے پاک رہ سکتا ہے ۔ انسان ۔ جو انسان واحد خدا پر اپنی امیدیں باندھتا ہے ۔ اس کے روحانی موت کے پھندے کٹ جاتے ہیں۔ جس کے دل میں الہٰی پیار کی تمنا اور بھوک پیاس ہے ۔ اے نانک اسے عذاب اور دکھ تکلیف نہیں آتی ۔

جِس کءُ ہرِ پ٘ربھُ منِ چِتِ آۄےَ ॥
سو سنّتُ سُہیلا نہیِ ڈُلاۄےَ ॥
جِسُ پ٘ربھُ اپُنا کِرپا کرےَ ॥
سو سیۄکُ کہُ کِس تے ڈرےَ ॥
جیَسا سا تیَسا د٘رِسٹائِیا ॥
اپُنے کارج مہِ آپِ سمائِیا ॥
سودھت سودھت سودھت سیِجھِیا ॥
گُر پ٘رسادِ تتُ سبھُ بوُجھِیا ॥
جب دیکھءُ تب سبھُ کِچھُ موُلُ ॥
نانک سو سوُکھمُ سوئیِ استھوُلُ ॥੫॥
لفظی معنی:
چیت ۔ یاد۔ سہیلا۔ سکھی ۔ ڈلاوے ۔ ڈگمگائے ۔ در سٹائیا۔ نظر آتا ہے ۔ سودھت ۔ صاف کرتے کرتے ۔ سمجھتے سمجھتے ۔ سیجھیا۔ سمجھ آگئی ۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔ تت ۔ حقیقت ۔ اصلیت ۔ بوجھیا۔ سمجھیا۔ مول ۔ بنیاد۔ سوکھم ۔ مراد نور۔ روشنی ۔ استھول ۔ پاورن ۔ عالم ۔ دنیا ۔ پھیلاؤ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دلمیں ہے یاد خدا وہ ہے عاشق الہٰی خدا رسیدہ و ہ ڈگمگاتا نہیں۔ جس پر ہو مہربان خود خدا اس خادم کو ہے خوف کس کا جیسا ہے نظر آرہا ہے ۔ جیسا ہے وہ خود انسان نظر آتاہے ۔ اپنی مخلوق میں ہے خالق بستا ۔ بھاری غور و خوض کے بعد یہ سمجھ آئی ہے اور رحمت مرشد سے حقیقت کا چلا ہے پتہ ۔ جہاں نظر جاتی ہے ۔ سب کی بنیاد خدا ہے ۔ اے نانک۔ نور بھی ہے وہی اور عالم بھی ہے آپ خدا۔ ساری قائنات قدرت و مخلوقات ہے آپ خدا۔

نہ کِچھُ جنمےَ نہ کِچھُ مرےَ ॥
آپن چلِتُ آپ ہیِ کرےَ ॥
آۄنُ جاۄنُ د٘رِسٹِ اند٘رِسٹِ ॥
آگِیاکاریِ دھاریِ سبھ س٘رِسٹِ ॥
آپے آپِ سگل مہِ آپِ ॥
انِک جُگتِ رچِ تھاپِ اُتھاپِ ॥
ابِناسیِ ناہیِ کِچھُ کھنّڈ ॥
دھارنھ دھارِ رہِئو ب٘رہمنّڈ ॥
الکھ ابھیۄ پُرکھ پرتاپ ॥
آپِ جپاۓ ت نانک جاپ ॥੬॥
لفظی معنی:
چلت ۔ کھیل۔ آدن۔ جاون۔ پیدا ہونا اور فوت ہوجانا۔ درشٹ۔ زیر نظر۔ ان درشٹ ۔ آنکھوں سے اوجھل۔ آگیا کاری ۔ فرمانبردار ۔ دھاری ۔ زیر نظام۔ سب سرشٹ۔ سارا عالم ۔ سارا جہان ۔ آپے آپ ۔ و احد از خود۔ سگل مینہ ۔ آپ ساری قائنات و مخلوقات می ں بھی خود۔ ایک جگت ۔ بیشمار طریقوں سے ۔ تھاپ ۔ پیدا کیا۔ اُٹھاپ ۔ مٹائیا۔ اوناسی ۔ لافناہ ۔ نہ مٹنے والا۔ کھنڈ۔ دھارن ۔ بناوٹ۔ دھار رہیو۔ پیدا کیا ہے ۔ برہمنڈ۔ عالم۔ جہاں۔ اہکہہ ۔ بیان و تحریر ہ سے بعید۔ ابھیو۔ راز۔ بھید۔ پر کہہ۔ انسان۔ پر تاپ ۔ پرکت۔
ترجمہ معہ تشریح:
دنیا میں نہ کچھ پیدا ہوتا ہے نہ فوت ہوتا ہے مٹتا ہے یہ ایک الہٰی کھیل ہے جو خدا خود کرتا ہے ۔ موت و پیدائش ۔ زیر نظر اور اوجھل اور سارا عالم زیر الہٰی فرمان بنائیا ہے ۔ واحد بھی وہ اور ساری قائنات اور مخلوقات میں بھی وہ بیشمار منصوبوں اور طریقوں سے پیدا کرنا ہے اور ختم کرتا ہے وہ خود لافناہ اور ختم ہو نے والا نہیں ہے ۔ ساری قائنات اور عالم اسی کا ہی پیدا کردہ ہے ۔ خدا تحریر و تعقیر سے باہر جسکا راز افشاں نہیں ہو سکتا جو با وقار و برکتا و شان ہے ۔ اے نانک۔ اگر خدا اپنے آپ کو خود یاد کرائے ۔ تبھی اس کی ریاض یا د ہو سکتی ہے ۔ ۔

جِن پ٘ربھُ جاتا سُ سوبھاۄنّت ॥
سگل سنّسارُ اُدھرےَ تِن منّت ॥
پ٘ربھ کے سیۄک سگل اُدھارن ॥
پ٘ربھ کے سیۄک دوُکھ بِسارن ॥
آپے میلِ لۓ کِرپال ॥
گُر کا سبدُ جپِ بھۓ نِہال ॥
اُن کیِ سیۄا سوئیِ لاگےَ ॥
جِس نو ک٘رِپا کرہِ بڈبھاگےَ ॥
نامُ جپت پاۄہِ بِس٘رامُ ॥
نانک تِن پُرکھ کءُ اوُتم کرِ مانُ ॥੭॥
لفظی معنی:
پربھ جاتا۔ خدا کو پہچانا۔ سوبھا دنت ۔ شہرت پائی ۔ سگل سنسار۔ سارے عالم۔ ادھرے ۔ بچے ۔ تن ۔ منت۔ ان کی پندو نصائح سے ۔ واعظ سے ۔ اپدیش سے ۔ پربھ کے سیو ک ۔ خادمان خدا۔ سب سگل ادھارن ۔ سب کو بچانے والے ہیں۔ دوکھ دسارن ۔ عذاب بھلاتے ہیں۔ بھیئے نہال۔ خوش ہوئے ۔ سیوا۔ خدمت۔ وڈبھاگے ۔ بلند قسمت ۔ وسرام۔ آرام و سکون۔ اتم۔ بلند عظمت ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جنہوں نے خدا کی پہچان کی شہرت پائی۔ سارے عالم نے ان کے پندو نصائح سے برائیوں سے بچاؤ پائیا۔ خادمان خدا سارے عالم کو بچاتے ہیں۔ خادمان خدا سب کے عذاب بھلاتے ہیں۔ رحمت سے اپنی مالک اپنے ساتھ ملاتا ہے ۔ کلام مرشد کی ریاض سے خوشیاں پاتا ہے ۔ ان کی خدمت میں وہی انسان خدمت کرتا ہے ۔ جس کے اوپر رحمت الہٰی ہے اور بلند قسمت والا ہے ۔ نام خدا کا لینے سے آرام و آسائش پاتا ہے ۔ اے نانک۔ اس انسان کو بلند عظمت سمجھ لے وقار ہمیشہ پاتا ہے ۔

جو کِچھُ کرےَ سُ پ٘ربھ کےَ رنّگِ ॥
سدا سدا بسےَ ہرِ سنّگِ ॥
سہج سُبھاءِ ہوۄےَ سو ہوءِ ॥
کرنھیَہارُ پچھانھےَ سوءِ ॥
پ٘ربھ کا کیِیا جن میِٹھ لگانا ॥
جیَسا سا تیَسا د٘رِسٹانا ॥
جِس تے اُپجے تِسُ ماہِ سماۓ ॥
اوءِ سُکھ نِدھان اُنہوُ بنِ آۓ ॥
آپس کءُ آپِ دیِنو مانُ ॥
نانک پ٘ربھ جنُ ایکو جانُ ॥੮॥੧੪॥
لفظی معنی:
پربھ کے رنگ ۔ الہٰی پیار میں۔ ہر سنگ۔ خدا ساتھ بستا ہے ۔سیہج سبھائے ۔ پر سکون قدرتی ۔ کرنیہار۔ کرنے والا۔ کار ساز۔ کرتار۔ میٹھ ۔ میٹھا۔ اچھا۔ جیسا سا ۔ جیس تھا ۔ تیسا۔ ویسا۔ درسٹانا۔ نظر آتا ہے ۔ اپجے ۔ پیدا ہوا ۔ سمائے ۔ مجذوب ہونا۔ سکھ ندھان۔ آرام و آسائش کا خزانہ ۔ بن آئے ۔ ان کے لئے ہی کتے ہیں۔ آپس کوؤ۔ اپنے آپ کو ۔ مان۔ عزت۔ وقار۔ پرتھ ۔ خدا۔ جن۔ خادم۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی خادم جو کچھ کرتا ہے ۔ الہٰی رضا و فرمان میں کرتاہے اور ہمیشہ الہٰی حضوری میں قیام کرتا ہے ۔ قدرتی طور پر جو ہوتا ہے اسے الہٰی رضا سمجھتا ہے ۔ اسی کو ہی خدا کی پہچان ہے ۔ اور پہچانا ہے ۔ جس کو الہٰی رضا و کار اچھی لگتی ہے اور ہر کار کرنے والا خدا کو سمجھتا ہے ۔ جس خدا نے پیدا کئے ہیں۔ اسی میں مجذوب رہتے ہیں۔ وہ سکھوں آرام و آسائش کا خزانہ ہوجاتے ہیں اور یہ عظمت انہیں کے لئے ہے ۔ اے نانک۔ خدا اور خادم خدا ایک سے ہیں۔ یہ وقار خدا اپنے آپ کو بخشش کرتا ہے ۔

سلوکُ ॥
سرب کلا بھرپوُر پ٘ربھ بِرتھا جاننہار ॥
جا کےَ سِمرنِ اُدھریِئےَ نانک تِسُ بلِہار ॥੧॥
لفظی معنی:
سرب کلا ۔ تمام قوتوں ۔ بھر پور۔ مکمل۔ کامل ۔ پر بھ خدا۔ برتھا جاننہار۔ دل کے درد کو جاننے والا۔ ادھرییئے ۔ برائیوں سے بچاؤ ہوئے ۔ تس۔ اس پر ۔ بلہار۔ صدقے جاؤ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا جو تمام قوتوں سے مالا مال ہے اور دل کے درد اور راز جاننے والا ہے ۔ جس کی یاد میں بچاو ہے ۔ اے ناک پر صدقے جائیں۔ قربان ہوئیے ۔

اسٹپدیِ ॥
ٹوُٹیِ گاڈھنہار گد਼پال ॥
سرب جیِیا آپے پ٘رتِپال ॥
سگل کیِ چِنّتا جِسُ من ماہِ ॥
تِس تے بِرتھا کوئیِ ناہِ ॥
رے من میرے سدا ہرِ جاپِ ॥
ابِناسیِ پ٘ربھُ آپے آپِ ॥
آپن کیِیا کچھوُ ن ہوءِ ॥
جے سءُ پ٘رانیِ لوچےَ کوءِ ॥
تِسُ بِنُ ناہیِ تیرےَ کِچھُ کام ॥
گتِ نانک جپِ ایک ہرِ نام ॥੧॥
لفظی معنی:
ٹوتی گانڈ نہار۔ دل کے ٹوٹے رشتے جوڑنے والا۔ گوپال۔ خدا۔ مالک ۔ آقا۔ سرب جیا۔ سارے جانداروں۔ پر تپال۔ پرورش کرنے والا۔ چنتا۔ فکر ۔ تشویش ۔ برتھا۔ خالی ۔ ہر جاپ ۔ خدا کو یاد کر ۔ اوناسی ۔ لافناہ ۔ لوچے ۔ چاہے ۔ گت۔ نجات۔
ترجمہ معہ تشریح:
پروردگار خدا ہے آپ ٹوٹے رشتے جوڑنے والا بھی خدا ہے آپ ۔ جس کے دلمیں سب کا فکر ہے ۔ وہ سب میں بستا ہے خالی نہیں اس کے بغیر کوئی ۔ اے دل ہمیشہ یاد کر اس کو جو لاثانی ہے لافنانی ہے جس جیسا علام میں کوئی نہیں۔ خواہ کوئی کتنی خواہش کیوں نہ کرے انسان اس کا کیا کچھ ہو سکتا نہیں۔ اے نانک۔ بہتری الہٰی نام کی ریاض میں ہے اس کے علاوہ تیری تمام کوشش بیکار ہیں۔

روُپۄنّتُ ہوءِ ناہیِ موہےَ ॥
پ٘ربھ کیِ جوتِ سگل گھٹ سوہےَ ॥
دھنۄنّتا ہوءِ کِیا کو گربےَ ॥
جا سبھُ کِچھُ تِس کا دیِیا دربےَ ॥
اتِ سوُرا جے کوئوُ کہاۄےَ ॥
پ٘ربھ کیِ کلا بِنا کہ دھاۄےَ ॥
جے کو ہوءِ بہےَ داتارُ ॥
تِسُ دینہارُ جانےَ گاۄارُ ॥
جِسُ گُر پ٘رسادِ توُٹےَ ہءُ روگُ ॥
نانک سو جنُ سدا اروگُ ॥੨॥
لفظی معنی:
روپ ونت۔ خوبصورت ۔ موہے ۔ا پنی خو بصورت سے متاثر ہوئے ۔ پربھ کی جوت۔ الہٰی نور۔ سب گھت۔ سارے دلوں میں۔ سوہے ۔ اچھی لگتی ہے ۔ گربھے ۔ تکبر ۔ غرور۔ گھمنڈ ۔ دربھے ۔ دولت ۔ سرمایہ ۔ سور ۔ سورما۔ بہادر۔ جنگجو ۔ پربھ کی کلا۔ الہٰی طاقت۔ دھاوے ۔ دوڑ ۔ دہوپ ۔ داتار۔ سخاوت کرنے والا۔ سخی۔ دانی ۔ داتا۔ گاوار۔ گنوار۔ جاہل۔ گر پرساد۔ رحمت مرشد سے ۔ ہوں روگ ۔ خودی ۔ خود پسندی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خوبصورتی پہ اپنی ناز کرتاہے انسان کو ہر دل میں بستا ہے ۔ بھگوان ۔ ہر دل میں اسی کانور ہے اگر کوئی دولت پر غرور کرتاہے ۔ یہ دولت دی ہوئی خدا کی ہے ۔ جو اپنے آپ کو بہادر کہلاتاہے ۔ الہٰی طاقت کے بغیر کیسے دوڑ دہوپ کر سکتاہے ۔ اگر کوئی سخی بن بیٹھے تو اس خدا کی پہچان کرنی چاہیے ۔ جو سب کو دیتا ہے ۔ رحمت مرشد سے جس کی خودی کی بیماری ختم ہوگئی ۔ اے نانک وہ ہمیشہ کے لئے تندرست ہے ۔

جِءُ منّدر کءُ تھامےَ تھنّمنُ ॥
تِءُ گُر کا سبدُ منہِ استھنّمنُ ॥
جِءُ پاکھانھُ ناۄ چڑِ ترےَ ॥
پ٘رانھیِ گُر چرنھ لگتُ نِسترےَ ॥
جِءُ انّدھکار دیِپک پرگاسُ ॥
گُر درسنُ دیکھِ منِ ہوءِ بِگاسُ ॥
جِءُ مہا اُدِیان مہِ مارگُ پاۄےَ ॥
تِءُ سادھوُ سنّگِ مِلِ جوتِ پ٘رگٹاۄےَ ॥
تِن سنّتن کیِ باچھءُ دھوُرِ ॥
نانک کیِ ہرِ لوچا پوُرِ ॥੩॥
لفظی معنی:
مندر۔ مکان۔ تھامے ۔ سہارا دیتا۔ تھمن۔ ستون ۔ مینہہ ۔ من کو ۔ دل کو ۔ سبد۔ کلام۔ واعظ ۔ نصیحت ۔ استھن ۔ سہارا ہے ۔ پاکھان۔ پتھر ناؤ۔ ناؤ۔ کشتی ۔ نگت ۔ پڑ کر ۔ نستر ے ۔ پار ہوجاتا ہے ۔ اندھکار۔ بھاری اندھیرے ۔ دیپک ۔ چراغ۔ پر گاس۔ روشنی ۔ گر درسن۔ دیدار مرشد ۔ وگاس۔ خوش ہوتاہے کھل جاتاہے ۔ مہاں اویان ۔ بھاری جنگل۔ مارگ۔ راستہ ۔ ۔ پاوے ۔ پائے ۔ تیؤ۔ ویسے ۔ ساد ہو سنگ ۔ صحبت پاکدامن۔ جوت۔ ذہنی نور۔ پر گٹاوے ۔ شہرت ملتی ہے ۔ تن سننن۔ ایسے عارفوں کی ۔ بانچھو ۔ چاہو۔ دہور۔ دہول۔ لوچا۔ خواہش ۔ پور ۔ پوری کر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جیسے مکان کو دیتا ہے سہارا ستون ہے ایسے ہی دل دل انسانی کو سہارا دیتا ہے کلام مرشد ۔ جیسے پتھر کشتی کے ذریعے کنارے تگ جاتاہے ۔ ایسے ہی پائے مرشد پڑ کر انسان زندگی کامیاب بناتاہے ۔ جیسے دیئے کی روشنی سے اندھیرا کا فور ہوجاتاہے ۔ا یسے ہی دیدار مرشد سے دل کھل جاتاہے ۔ جیسے گھنے جنگل میں راہ گذر راستہ پاتاہے ۔ ایسے ہی صحبت و پاکدامن سے نور الہٰی نور میں آتا ہے ۔ اے خدا نانک کی یہ خواہش پوری کر ایسے عارفوں کے پاؤں کے دہول عطا کر ۔

من موُرکھ کاہے بِللائیِئےَ ॥
پُرب لِکھے کا لِکھِیا پائیِئےَ ॥
دوُکھ سوُکھ پ٘ربھ دیۄنہارُ ॥
اۄر تِیاگِ توُ تِسہِ چِتارُ ॥
جو کچھُ کرےَ سوئیِ سُکھُ مانُ ॥
بھوُلا کاہے پھِرہِ اجان ॥
کئُن بستُ آئیِ تیرےَ سنّگ ॥
لپٹِ رہِئو رسِ لوبھیِ پتنّگ ॥
رام نام جپِ ہِردے ماہِ ॥
نانک پتِ سیتیِ گھرِ جاہِ ॥੪॥
لفظی معنی:
یہ حصہ درج نہیں ہے
ترجمہ معہ تشریح:
اے نادان دل کیوں چلاتا ہے لکھا ہے پہلے سے تیرے اعمالنامے میں وہی تو پاتا ہے ۔ عذاب و آسائش خدا ہی دینے والا ہے ۔ غیروں کو چھوڑ کر اسے بسا دلمیں اے دل کیوں بھولا ہے خدا جو کچھ کرتا ہے اسی کو آرام و آسائش جان لے ۔ اے انسان کیوں لالچی پتنگے کی مانند لطفوں میںہے ۔ محو ۔ یہ تو بتا کونسی چیز تیرے ساتھ تھی آئی ۔ اے انسان نام خدا کا دل میں بسا۔ اے نانک۔ باعزت با وقار رحلت فرما

جِسُ ۄکھر کءُ لیَنِ توُ آئِیا ॥
رام نامُ سنّتن گھرِ پائِیا ॥
تجِ ابھِمانُ لیہُ من مولِ ॥
رام نامُ ہِردے مہِ تولِ ॥
لادِ کھیپ سنّتہ سنّگِ چالُ ॥
اۄر تِیاگِ بِکھِیا جنّجال ॥
دھنّنِ دھنّنِ کہےَ سبھُ کوءِ ॥
مُکھ اوُجل ہرِ درگہ سوءِ ॥
اِہُ ۄاپارُ ۄِرلا ۄاپارےَ ॥
نانک تا کےَ سد بلِہارےَ ॥੫॥
لفظی معنی:
وکھر۔ سودا۔ ابھیمان۔ غرور۔ تکبر۔ تج ۔ چھوڑ ۔ لیہو من مول ۔ من کی قیمت کے بدلے وہ سوداے ۔ ہر دے ۔د ل ۔ تول۔ اندازہ کر ۔ اسے پر کہہ ۔ کھیپ ۔ سودے کا لدھا ۔ سنتیہہ سنگ چال ۔ عارفان الہٰی کی صحبت اختیار کر ۔ اور تیاگ ۔ دوسرے چھو ڑ دے ۔ دکھیا جنجال۔ دنیاوی دولت کے کام جو ایک زندگی کے لئے پھندے ہیں۔ دھن ۔ شاباش۔ تعریف۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان جس چیز کی سودا گری کے لئے تجھے یہ زندگی ملی ہے ۔ وہ سودا یعنی الہٰی نام عارفان الہٰی کے پاس ہے ۔ اے انسان غرور اور تکبر چھوڑ کر اپنے من کے عوض الہٰی نام کا سودا لے لے ۔ اور اسے اپنے ذہن اور دل و دماغ میں اسکا اندازہ اور شناخت کر ۔ پاکدامن عارفان الہٰی کی صحبت اختیار کر دنیاوی دولت کے دوسرے کام ترک کر ۔ تاکہ تو دربار الہٰی میں سر خرو ہوجائے ۔ تاکہ لوگ تجھے شاباش کہیں اور تیری تعریف کریں۔ مگر یہ سوداگری کوئی شاذو نادر ہی کوئی انسان کرتا ہے ۔ اے نانک۔ ایسے انسان پر قربان جائیں۔

چرن سادھ کے دھوءِ دھوءِ پیِءُ ॥
ارپِ سادھ کءُ اپنا جیِءُ ॥
سادھ کیِ دھوُرِ کرہُ اِسنانُ ॥
سادھ اوُپرِ جائیِئےَ کُربانُ ॥
سادھ سیۄا ۄڈبھاگیِ پائیِئےَ ॥
سادھسنّگِ ہرِ کیِرتنُ گائیِئےَ ॥
انِک بِگھن تے سادھوُ راکھےَ ॥
ہرِ گُن گاءِ انّم٘رِت رسُ چاکھےَ ॥
اوٹ گہیِ سنّتہ درِ آئِیا ॥
سرب سوُکھ نانک تِہ پائِیا ॥੬॥
لفظی معنی:
چرن۔ پاؤں۔ سادھ ۔ پاکدامن۔ جسنے اپنی زندگی چلن اور اخلاق پاک بنالیا ہے ۔ ارپ ۔ بھینٹ ۔ جیؤ۔ زندگی۔ دہور۔ دہول۔ اشنان۔ غسل۔ قربان۔ صدقے ۔ بلہارے ۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت سے ۔ کیرتن۔ صفت صلاح۔ حمدوثناہ ۔ وگھن۔ رکاوٹ ۔ ہر گن گائے ۔ الہٰی صفت صلاح ۔ انمرت رس ۔ آبحیات کا لطف ۔ چاکھے ۔ مزہ لے ۔ اوٹ ۔ آسرا ۔ گہی ۔ لی ۔ پکڑی ۔ سنتیہہ در۔ در عارفان۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان پاکدامن عارف پر اپنی زندگی قربان کر دے اس کے پاؤں صافر کر اور آبحیات پی ۔ کیونکہ خدمت پاکدامن عارف سے زندگی پاک ہو جاتی ہے ۔ اور اپنی زندگی اس کے حوالے کر دو بھینٹ چڑھادو۔
پاکدامن عارف کی دہول میں اشنان کرو مراد اس کے قدموں پر چلو اور اس پر قربان ہو۔ خدمت پاکدامن مشکل سے ملتی ہے اس کی صحبت میں خدا کی حمدوثناہ کرؤ۔
پاکدامن عارف بیشمار رکاوٹوں سے بچاتا ہے ۔ اور الہٰی صفت صلاح کرکے آب حیات نام کا لطف لیتا ہے ۔ خدمت عارفاں خوش قسمتی سے حاصل ہوتی ہے ۔ عارفوں کے سہارے ہی عارفوں کے در پر آئیا ہوں۔ اے نانک۔ اسے تمام آرام و آسائش حاصل ہوئے ہیں۔

مِرتک کءُ جیِۄالنہار ॥
بھوُکھے کءُ دیۄت ادھار ॥
سرب نِدھان جا کیِ د٘رِسٹیِ ماہِ ॥
پُرب لِکھے کا لہنھا پاہِ ॥
سبھُ کِچھُ تِس کا اوہُ کرنےَ جوگُ ॥
تِسُ بِنُ دوُسر ہویا ن ہوگُ ॥
جپِ جن سدا سدا دِنُ ریَنھیِ ॥
سبھ تے اوُچ نِرمل اِہ کرنھیِ ॥
کرِ کِرپا جِس کءُ نامُ دیِیا ॥
نانک سو جنُ نِرملُ تھیِیا ॥੭॥
لفظی معنی:
مبرتک ۔ جسمانی طور پر مردہ ۔ روحانی طور پر مردہ ۔ یعنی بد اخلاق ۔ انسانیت سے مبرا۔ جیو انہار۔ روحانی زندگی بخشنے والا۔ اخلاقی یا روحانی زندگی عنایت کرنے کے لائق ۔ آدھار۔ آسرا۔ سہارا۔ سرب۔ سارے خزانے ۔ درشٹی ۔ نگاہ ۔ نظریہ ۔ پرب۔ پہلے ۔ لکہے ۔ اعمالنامے میں تحری شدہ ۔ پاہے ۔ پاتا ہے ۔ سب کچھ تس کا ۔ وہ ساری قائنات قدرت کا مالک ہے ۔ کرنے جوگ۔ کرنے کی اس میں قوت توفیق ہے ۔ تس بن۔ اس کے بغیر ۔ دوسرا ۔ خدا کے بغیر دوسرا۔ ہوگ۔ ہوگا۔ دن رینی ۔ روز وشب نرمل ۔ پاک۔ اوچ۔ بلند پایہ ۔ کرنی ۔ اعمال کر کرپا۔ پانی کرم و عنایت سے نام ۔ سچ ۔ تھیا ۔ ہوا
ترجمہ معہ تشریح:
خدا جسمانی و روحانی طور پر مردہ شدہ انسان کو زندہ کر نے کی حیثیت رکھتا ہے ۔ بھوکے کے لئےا یک سہارا ہے اور آسرا دیتا ہے ۔ سارے عالم کے خزانے خدا کی زیر نظر ہیں انسان پہلے سے کئے اعمال جو اس کے اعمال نامے میں تحریر میں اسکا عوضانہ پاتاہے ۔
سارا عالم اور قائنات قدرت کا مال آپ خدا ہے اس کے بغیر اسکا ہم رتبہ نہ کوئی ہوا ہے نہ ہوگا وہ لاثانی ہے ۔
اے انسان ہمیشہ روز و شب اسے یاد کر اس کی ریاض کر یہی پاک اعمال اور تما اعمالوں سے بلند اعمال اور پاک اعمال ہے ۔ خدا جسے اپنی کرم و عنایت اور رحمت جسے نام یعنی سچ عنایت کرتا ہے ۔ ہے ۔ اے نانک۔ وہ پاک ہوجاتا ہے ۔

جا کےَ منِ گُر کیِ پرتیِتِ ॥
تِسُ جن آۄےَ ہرِ پ٘ربھُ چیِتِ ॥
بھگتُ بھگتُ سُنیِئےَ تِہُ لوءِ ॥
جا کےَ ہِردےَ ایکو ہوءِ ॥
سچُ کرنھیِ سچُ تا کیِ رہت ॥
سچُ ہِردےَ ستِ مُکھِ کہت ॥
ساچیِ د٘رِسٹِ ساچا آکارُ ॥
سچُ ۄرتےَ ساچا پاسارُ ॥
پارب٘رہمُ جِنِ سچُ کرِ جاتا ॥
نانک سو جنُ سچِ سماتا ॥੮॥੧੫॥
لفظی معنی:
جاکے ۔ جس کے ۔ من دل۔ گر ۔ مرشد۔ فلسفہ ۔ پرتیت ۔ عقیدت ۔ و شواش۔ بھروسا۔ چیت ۔ دلمیں بھگت ۔ عابد۔ عاشق الہٰی ۔ سنیئے ۔ سنتے ہیں۔ لوئے ۔ لوگوں میں۔ ایکو ۔ واحد ۔ سچ کرنی ۔ سچا اعمال رہت۔ رہنی ۔ کردار۔ سچ ہر دے ۔ دل میں سچ سچ مکھ کہت ۔ زبان سے سچ کہنا۔ ساچی درشٹ ۔ سچا نظریہ ۔ سچ درتے ۔ سچا ور تاؤ۔ سچا بیوہار۔ آکار۔ پسار۔ پھیلاؤ۔ پار برہم۔ پار لگا نے والا۔ خدا۔ سچ کرجاتا ہے ۔ سچا سمجھ لیا۔ سچ سماتا ۔ وہ سچا ہوگیا اس کے دل میں سچ بس گیا اس کے اعمال و کردار سچ ہوگئے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دل میں ( خدا ) کے تین عقیدت پیدا ہوئی ( خدا ) مرشد میں بھروسہ ہوگیا۔ اس کے دل میں خدا بس گیا ۔ تینوں علاموں میں عابد۔ عاشق الہٰی کہے سنا۔ جاتا ہے ۔ جس کےد ل میں خدا بس جاتاہے ۔ اس کے اعمال عملی زندگی زندگی گذارنے کے اصول سچ پر مبنی ہیں زبان سے سچ بولتا ہے ۔ نریہ زاویہ نگاہ سچا ہے ۔ اسکا دائرہ کار سچا ہے ۔س چا برتاؤ ہے ۔ یعنی اسکا زندگی کا سارا پھیلاؤ سچا ہے ۔ اے نانک۔ اس نے سچا اپنا لیا سچا ہوگیا ۔

سلوکُ ॥
روُپُ ن ریکھ ن رنّگُ کِچھُ ت٘رِہُ گُنھ تے پ٘ربھ بھِنّن ॥
تِسہِ بُجھاۓ نانکا جِسُ ہوۄےَ سُپ٘رسنّن ॥੧॥
لفظی معنی:
روپ ۔ شکل۔ ریکھ ۔ لکیر ۔ تریہہ گن ۔تینوں اوصاف زندگی ۔ ترقی ۔سچائی اور لالچ سے اوصاف سے بلند۔ بھن۔ علیحدہ ۔ بجہائے ۔ سمجھائے ۔ سوپر سن ۔ خوش۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کی یہ کون سی شکل وصورت نہ کوئی رنگ ہے خدا انسانی زندگی کے تینوں اوصاف سے پاک اور بلند اوصاف والا ہے ۔ اے نانک۔ خدا اسے الہٰی اوصاف کی قدو قیمت سمجھاتا ہے جس سے خود خوش ہوکر اپنا نور دکھتا ہے ۔

اسٹپدیِ ॥
ابِناسیِ پ٘ربھُ من مہِ راکھُ ॥
مانُکھ کیِ توُ پ٘ریِتِ تِیاگُ ॥
تِس تے پرےَ ناہیِ کِچھُ کوءِ ॥
سرب نِرنّترِ ایکو سوءِ ॥
آپے بیِنا آپے دانا ॥
گہِر گنّبھیِرُ گہیِرُ سُجانا ॥
پارب٘رہم پرمیسُر گوبِنّد ॥
ک٘رِپا نِدھان دئِیال بکھسنّد ॥
سادھ تیرے کیِ چرنیِ پاءُ ॥
نانک کےَ منِ اِہُ انراءُ ॥੧॥
لفظی معنی:
اوناسی ۔ لا فناہ ۔ نہ مٹتے والا۔ راکھ ۔ بسا ۔ مانکھ ۔ انسان ۔ پریت۔ پیار۔ تیاگ۔ چھوڑ۔ تس تے پرے ۔ اس کے علاوہ ۔ اس کے بغیر ۔ کوئے ۔ کوئی ۔ سرب ۔ سارے ۔ نرنتر۔ لگاتار ۔ بینا۔ دور اندیش۔ داتا۔ دانشمند ۔ با عقل ۔ با شعور ۔ گہر ۔ گہرائی تک سوچنے والا ۔ گنبھیر ۔ سنجیدہ ۔ گہیر ۔ گہرے راز سمجھے والان ۔ سجان ۔ بیدار مغرز ۔ ذہن۔ پار برہم ۔پار لگانے والا۔ کامیاب بنانے والا۔ پر میسر۔ بھاری ۔ بھاری مالک۔ گو بند۔ دھرتی کا مالک ۔ کرپان دھان۔ رحمتوں کا خزانہ ۔ رحما ن الرحیم ۔ دیال۔ مہربان۔ بخشند۔ بخشنے والا۔ سادھ۔ جسے ۔ اخلاق یا روحانی پاکیزگی حاسل کر لی ہو اور ذہن درست کر لیا ہو۔ انراؤ۔ خواہش ۔کشش۔ ارادہ ۔
ترجمہ معہ تشریح: ۔
اے انسان لافناہ خدا دلمیں بساو اور انسانی محبت چھوڑ دے ۔ا س کے علاوہ نا کوئی جاندار نہ کوئی تسے ہے ۔ سب میں وہی بستا ہے ۔ وہی دور اندیش اور دانشمند ہے ۔ وہی سنجیدہ ۔ ذی ہوش ۔گہرائی تک سوچنے اور سمجھنے والا ہے ۔ وہی زمین کا مالک ۔ بھاری آقا اور کامیابی دینے والا ہے ۔ رحمت کا خزانہ مہربان اور بخشش کرنے والا ہے ۔ اے ناک یہ میری دلی خواہش ہے کہ مجھے پاکدامن کے پاؤں پڑوں اس کےسائے میںر ہوں

منسا پوُرن سرنا جوگ ॥
جو کرِ پائِیا سوئیِ ہوگُ ॥
ہرن بھرن جا کا نیت٘ر پھورُ ॥
تِس کا منّت٘رُ ن جانےَ ہورُ ॥
اند روُپ منّگل سد جا کےَ ॥
سرب تھوک سُنیِئہِ گھرِ تا کےَ ॥
راج مہِ راجُ جوگ مہِ جوگیِ ॥
تپ مہِ تپیِسرُ گ٘رِہست مہِ بھوگیِ ॥
دھِیاءِ دھِیاءِ بھگتہ سُکھُ پائِیا ॥
نانک تِسُ پُرکھ کا کِنےَ انّتُ ن پائِیا ॥੨॥
لفظی معنی:
منسا۔ منشا۔ ارادہ ۔ خواہش۔ پورن۔ مکمل ۔ سرنا۔ پناہ۔ سایہ ۔ جوگ۔ قابل با توفیق۔ کر ۔ ہاتھ۔ سوئی ۔ وہی ۔ ہوگ۔ ہوگا۔ ہرن۔ مٹانا۔ فناہ کرنا۔ بھرن۔ پرورش ۔ نیتر۔ آنکھ ۔ پھور۔ جھپکنا ۔ منتر۔ پوشیدہ راز ۔ ہور ۔ دوسرا۔ انند۔ سکون ۔ منگل ۔ خوشی۔ سد ۔ ہمیشہ ۔ جاکے ۔ جس کے ۔ سرب تھوک ۔ کل قائنات ۔ گر ہست ۔ خانہ داری گھر یلو زندگی ۔ بھوگی ۔ خانہ دار ۔ قبیل وار ۔ گھر اری ۔ دھیائے ۔ ہوش و حواس سے یکسو کرکے توجہ ۔ تس پر کہہ کا اس انسان کا ۔ کنے ۔ کسی نے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا انسانی خواہشات کو پایہ تکمیل تک پہچانے کی حیثیت رکھتا ہے ۔ ۔ جو اس کی قسمت میں تحریر ہے وہی ہوگا۔ وہ آنکھ جھپکنے کے وقفے میں فناہ اور پرورش کی حثیثت رکھتا ہے ۔ اس کے پوشیدہ راز دنیا میں دوسرا کوئی نہیں سمجھتا۔ جس خدا کے گھر میں ہمیشہ سکون اور خوشیاں ہیں اور تمام عالم و قائنات کی نعمتیں اس کے گھر میں سنتے ہیں۔ حکمرانوں میں حکمران خدا رسیدگان میں خدا رسیدہ عابدوں میں عابد اور خانہ داروں میں خانہ دار اور قبیلہ دار ہے ۔ عاشقان الہٰی اس کی یاد سے آرام و آسائش پاتے ہیں۔ اے نانک کسی نے بھی اس کی حیثیت و ہستی کا اندازہ نہیں پائیا ۔

جا کیِ لیِلا کیِ مِتِ ناہِ ॥
سگل دیۄ ہارے اۄگاہِ ॥
پِتا کا جنمُ کِ جانےَ پوُتُ ॥
سگل پروئیِ اپُنےَ سوُتِ ॥
سُمتِ گِیانُ دھِیانُ جِن دےءِ ॥
جن داس نامُ دھِیاۄہِ سےءِ ॥
تِہُ گُنھ مہِ جا کءُ بھرماۓ ॥
جنمِ مرےَ پھِرِ آۄےَ جاۓ ॥
اوُچ نیِچ تِس کے استھان ॥
جیَسا جناۄےَ تیَسا نانک جان ॥੩॥
لفظی معنی:
لیلا۔ کھیل۔ مت۔ اندازہ ۔ سگل ۔ سارے ۔ دیو ۔ فرشتے ۔ دیوتے ۔ ہارے ۔ شکست کھا گئے ۔ اوگا ہے ۔ گہری ۔ جستجو کرتے ہوئے ۔ اپنے سوت۔ زیر نظام ۔ زیر فرمان۔ سمت ۔ اچھی سمجھ ۔ اچھی سوچ۔ گیان ۔ علم ۔ دھیان۔ توجہ ۔ جن دئے ۔ جس نے دیئے ۔ جن داس ۔ وہی خادم۔ دھیاوے سیئے ۔ وہی اسکو یاد اور ریاض کرتا ہے ۔ تیہہ گن ۔ تینوں مادیاتی اوصاف ۔ ترفی ۔ سچائی ۔ اور لالچ ۔ بھر مائے ۔ بھٹکاتا ہے ۔ جنم مرئے پھر آوے جائے ۔ تناسخ میں پڑا رہتا ہے ۔ بلندی و پسماندگی ہر جگہ بستا ہے ۔ اے نانک جیسی عقل و ہوش انسان کو عنایت کرتا ہے ویسا انسان ہوجاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ حصہ درجہ نہیں ہے

نانا روُپ نانا جا کے رنّگ ॥
نانا بھیکھ کرہِ اِک رنّگ ॥
نانا بِدھِ کیِنو بِستھارُ ॥
پ٘ربھُ ابِناسیِ ایکنّکارُ ॥
نانا چلِت کرے کھِن ماہِ ॥
پوُرِ رہِئو پوُرنُ سبھ ٹھاءِ ॥
نانا بِدھِ کرِ بنت بنائیِ ॥
اپنیِ کیِمتِ آپے پائیِ ॥
سبھ گھٹ تِس کے سبھ تِس کے ٹھاءُ ॥
جپِ جپِ جیِۄےَ نانک ہرِ ناءُ ॥੪॥
لفظی معنی:
نانا ۔ کئی ۔ روپ ۔ شکلیں۔ رنگ ۔ پیار۔ بھیکھ ۔ بھیس۔ اک رنگ ۔ واحد۔ بدھ ۔ طریقے ۔ وستھار۔ پھیلاؤ ۔پرتھ واناسی ۔ لافناہ خدا۔ ایکنکار ۔ واحد خدا۔ چلت۔ کھیل۔ برتاؤ۔ کھن ماہے ۔ پل بھر میں ۔ پور ۔ رہیو پورن ۔ مکمل طور پر بستا ہے س۔ سب ٹھائے ۔ سب جگہ ۔ نانا بدھ۔ بیشمار طریقوں سے ۔ بنت بنائے ۔ منصوبے تیار کرکے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے خدا تو بیشمار شکلوں اور صورتوں والا ہے ۔ تیرے بیشمار بھیس اور رنگ ہیں ۔ خدا نے بیشمار طریقوں سے اپنا پھیلا ؤ کیا ہے ۔ بھیس بنائے طرح طرح کے تب بھی واحد ہے خدا ۔ فناہ ۔ پل بھر میں بشیمار کھیل تماشے کرتا ہے اور ہر جگہ و ہ ستا ہے ۔ بیشمار طریقے اور منصوبے وہ بناتا ہے ۔ خود ہی قدر وقیمت پاتا ہے ۔ ہر دلمیں ہے ٹھکانا اسکا ہر دلمیں بستا ہے ۔ یاد خدا سے ریاض خدا سے روحانی زندگی نانک پاتا ہے ۔

نام کے دھارے سگلے جنّت ॥
نام کے دھارے کھنّڈ ب٘رہمنّڈ ॥
نام کے دھارے سِم٘رِتِ بید پُران ॥
نام کے دھارے سُنن گِیان دھِیان ॥
نام کے دھارے آگاس پاتال ॥
نام کے دھارے سگل آکار ॥
نام کے دھارے پُریِیا سبھ بھۄن ॥
نام کےَ سنّگِ اُدھرے سُنِ س٘رۄن ॥
کرِ کِرپا جِسُ آپنےَ نامِ لاۓ ॥
نانک چئُتھے پد مہِ سو جنُ گتِ پاۓ ॥੫॥
لفظی معنی:
نام۔ سچ ۔ خدا ۔ سچ ۔ حق و حقیقت ۔ دھارے ۔ آسرے ۔ سگلے ۔ سارے ۔ جنت۔ جاندار۔ کھنڈ ۔ زمین کے حصے ۔ برہمنڈ۔ خدا ۔ قائنات قدرت ۔ سمرت۔ سمرتیاں وغیرہ ۔ آگاس۔ آسمان۔ پاتال ۔ زیر زمین ۔ آکار۔ پھیلاؤ ۔ پریاں۔ عالم کے حصے ۔ ملک ۔ براعظم سرون ۔ کان ۔
ترجمہ معہ تشریح:
تمام جاندار خدا کے سہارے ہیں اور سارا عالم خاد کے سہارے ہے ۔ نام اور سچ کے سہارے ہی سمرتیاں وید ۔ پران ہیں۔ علم کے متعلق گفت و شید ا ور ان کو سنا بھی نام کے آسراے ہے اور ہوش و ہواس یکسو کرنا بھی خدا کے سہارے ہے ۔
زمین و آسمان اور زیر زمین بھی خدا کے آسرا قائم ہے ۔ غرض یہ کہ تمام پھیلاؤ ہی خدا کے آسرے قائم ہے ۔ نام آسرے تینوں عالم ہی خدا کے سہارے قائم ہیں۔ اور الہٰی نام کو سن کر ہی انسان کو اسرا ملتا ہے ۔ خدا جس کو اپنی کرم و عنایت سے نام سے رشتہ بناتا ہے ۔ اے نانک وہ چوتھی روحانی منزل پالیتا ہے ۔

روُپُ ستِ جا کا ستِ استھانُ ॥
پُرکھُ ستِ کیۄل پردھانُ ॥
کرتوُتِ ستِ ستِ جا کیِ بانھیِ ॥
ستِ پُرکھ سبھ ماہِ سمانھیِ ॥
ستِ کرمُ جا کیِ رچنا ستِ ॥
موُلُ ستِ ستِ اُتپتِ ॥
ستِ کرنھیِ نِرمل نِرملیِ ॥
جِسہِ بُجھاۓ تِسہِ سبھ بھلیِ ॥
ستِ نامُ پ٘ربھ کا سُکھدائیِ ॥
بِس٘ۄاسُ ستِ نانک گُر تے پائیِ ॥੬॥
لفظی معنی:
روپ ۔ شکل ۔ ست ۔ سچ ۔ صدیوی ۔ استھان ۔ ٹھکانہ ۔ پرکہہ۔ وجود ۔ ہستی ۔ کیول۔ صرف۔ پروھان۔ اعلے ہستی ۔ سب سے اور سب میں منتیخبہ ۔ کر توت ۔ اعمال۔ کامل۔ بانی ۔ کلام۔ بول۔ سمانی ۔ بستا ہے ۔ کرم ۔ اعمال۔ رچنا۔ اسکی پیدا کی ہوئی ۔ قائنات ۔ مول ۔ بنیاد۔ اتپت ۔ پیدائش کی ہوئی ۔ نرمل نرملی ۔ پاک سے زیادہ پاک ۔ بجھائے ۔ سمجھائے ۔ تسے ۔ اسے ۔ سب بھلی ۔ سارا ۔ تمام نیک ہے ۔ ست نام۔ سچا نام۔ پرتھ ۔ خدا۔ سکھدائی ۔ آرام دینے والا۔ امدادی ۔ بشواس۔ بھروسا ۔ یقین ۔ گر ۔ مرشد
ترجمہ معہ تشریح:
جس کی شکل و صورت ہے سچی اور سچا ہے جسکا مقام۔ خالق ہے خلقت کا مالک ہے ۔ سب سے بلند ہستی کا مالک ہے ۔ سچے ہیں اعمال اس کے سچے کاموں والا ہے ۔ سچا اسکا کلام بھی ہے ۔ سچا ہے وہ خالق سچا سچا سب میں بستا ہے ۔ سچے فعل افعال ہیں اس کے سچا پیدا کیا پسار ہے ۔ بنیاد ہے سچ پر اس کی سچ ہی کیا ہے ۔ پیدا۔ سچے ہیں اعمال اس کے پاک سے بھی پاک ہیں وہ ۔ جس کو سمجھائے وہ سب کو نیک بنائے وہ ۔ سچا نام خدا کا ہے ۔ سب کو سکہہ دینے والا ہے ۔ یہ سچا ایمان و صدق ہمیشہ نانک مرشد سے پائیا جاتا ہے ۔

ستِ بچن سادھوُ اُپدیس ॥
ستِ تے جن جا کےَ رِدےَ پ٘رۄیس ॥
ستِ نِرتِ بوُجھےَ جے کوءِ ॥
نامُ جپت تا کیِ گتِ ہوءِ ॥
آپِ ستِ کیِیا سبھُ ستِ ॥
آپے جانےَ اپنیِ مِتِ گتِ ॥
جِس کیِ س٘رِسٹِ سُ کرنھیَہارُ ॥
اۄر ن بوُجھِ کرت بیِچارُ ॥
کرتے کیِ مِتِ ن جانےَ کیِیا ॥
نانک جو تِسُ بھاۄےَ سو ۄرتیِیا ॥੭॥
لفظی معنی:
سادہو اپیدس۔ واعظ پاکدامن۔س ت ۔ بچن ۔ سچا کلام۔ ست تے جن۔ سچے ہیں وہ انسان ۔ جا کے روے پر ویس ۔ جن کے دل میں بس جائے خدا۔ ست ۔ نرت۔ سچا خیال۔ بوجہے ۔ سمجھے ۔ انم جپت ۔ نام کی ریاض و یاد ۔ گت۔ نجات۔ ذہنی غلامی سے چھٹکارہ ۔ مراد آزادی ۔ مت۔ اندازہ ۔ سر شٹ ۔ دنیا۔ جہان ۔ عالم۔ کرنیہار۔ کرنے کی حیثیت میں ہے ۔ طارق رکھتا ہے ۔ کرنے ۔ کرنے والے کی ۔ مت ۔ اندازہ ۔ کیا۔ جسے پیدا کیا ہے ۔ بھاوے ۔ چاہتا ہے ۔ سو ورتیا ۔ وہی ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
واعظ یا نصیحت عارفان سچ سچی اور دیرپا ہے ۔ اور جن کے دل میں بس جاتا ہے وہ بھی سچا ہوجاتا ہے ۔ سچا ہے خیال سمجھے اگر کوئی ۔ نام کی یاد سے اونچی منزل پاتا ہے ۔ خدا خود سچ ہے جو کرتاہے وہ بھی سچ ہے اپنے آپ کی حیثیت و قوت کا اندازہ اسی کو ہے ۔ جسکا ہے یہ عالم کارساز کرتا ر وہی ہے کسی دیگر کو نہ سمجھو کرو خیال۔ خود جوہے مخلوق جہان میں خالق کو کیا سمجھائیگا ۔ اے نانک۔ جو منظور خودا کو ہے وہ ہی ہو جائیگا۔

بِسمن بِسم بھۓ بِسماد ॥
جِنِ بوُجھِیا تِسُ آئِیا س٘ۄاد ॥
پ٘ربھ کےَ رنّگِ راچِ جن رہے ॥
گُر کےَ بچنِ پدارتھ لہے ॥
اوءِ داتے دُکھ کاٹنہار ॥
جا کےَ سنّگِ ترےَ سنّسار ॥
جن کا سیۄکُ سو ۄڈبھاگیِ ॥
جن کےَ سنّگِ ایک لِۄ لاگیِ ॥
گُن گوبِد کیِرتنُ جنُ گاۄےَ ॥
گُر پ٘رسادِ نانک پھلُ پاۄےَ ॥੮॥੧੬॥
لفظی معنی:
بسمن۔ حیرت۔ بسم۔ حیران۔ بسماد۔ حیران۔ سوآد۔ لطف۔ مزہ ۔ رنگ۔ پیار ۔ راج ۔ محو ۔ مست مجذوب۔ جن ۔ا نسان ۔ خادم۔ بچن۔ کلام ۔ پدارتھ ۔ نعمتیں۔ اوئے ۔ وہ ۔ داتے ۔ سخی ۔ کاسنہار ۔ کاٹتے والے ۔ مٹانے والے ۔ دکھ ۔ عذاب۔ سنگ۔ ساتھ ۔ قربت۔ سنسار۔ عالم۔ جہان ۔ دنیا۔ سیوک۔ خادم ۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت۔ لو۔ محبت۔ پیار۔ لگاؤ۔ رشتہ ۔ گن گوبند۔ حمد خدا۔ کیرتن ۔ حمدوثناہ ۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جنہوں نے خدا کو سمجھا حیرت زدہ اور حیران ہوئے اور اسکا لطف اُٹھائیا انہوں نے ۔ الہٰی عشق و محبت میں جو محو و مجذوب ہوئے ۔ کلام مرشد سے برآور ہوئے نعمتیں پائیں۔ ایسے سخی عذاب مٹانے والے ہیں۔ ان کی صحبت و قربت سے عالم کے بیڑے پار ہوئے ۔ حمد خدا کی جوہیں کرتے اور اوصاف الہٰی گاتے ہیں۔ رحمت مرشد سے نانک عالم میں پھل پاتے ہیں۔

سلوکُ ॥
آدِ سچُ جُگادِ سچُ ॥
ہےَ بھِ سچُ نانک ہوسیِ بھِ سچُ ॥੧॥
لفظی معنی:
آد۔ سچ ۔ جگاو۔ سچ ہے بھی سچ ۔ ناک ہو سی بھی سچ۔
ترجمہ معہ تشریح:
آغاز جہاں سے پہلے سچا سچا آغاز میں بھی وہ سچا ہے وہ آج بھی نانک سچا ہوگا کل بھی وہ آد۔ آغاز سے پہلے ۔ جگاو۔ آغاز میں ۔

اسٹپدیِ ॥
چرن ستِ ستِ پرسنہار ॥
پوُجا ستِ ستِ سیۄدار ॥
درسنُ ستِ ستِ پیکھنہار ॥
نامُ ستِ ستِ دھِیاۄنہار ॥
آپِ ستِ ستِ سبھ دھاریِ ॥
آپے گُنھ آپے گُنھکاریِ ॥
سبدُ ستِ ستِ پ٘ربھُ بکتا ॥
سُرتِ ستِ ستِ جسُ سُنتا ॥
بُجھنہار کءُ ستِ سبھ ہوءِ ॥
نانک ستِ ستِ پ٘ربھُ سوءِ ॥੧॥
لفظی معنی:
ست۔ سچ ۔ صدیوی ۔ پر سنہار ۔ چھونے والے ۔ پوجا۔ پر ستش۔ سیودار۔ خادم۔ درسن ۔ دیدار۔ پیکھنہار۔ دیدار کرنے والا ۔ نام ست ۔ خدا کا نام سچ ہے ۔ دھیاونہار۔ اسے یاد کرنے والا۔ توجہ دینے والا۔ آپ سچ ۔ خود سچا ہے ۔ ست سبھ دھاری ۔ جس نے سارے عالم کا نظام قائم کیا ہے ۔ وہ سچا ہے ۔ آپے گن۔ خود ہی وصف ہے ۔ گنکاری ۔ گن کرنے والا۔ سبد۔ کلام۔ بکتا ۔ بیان کرنے والا۔ سرت۔ ہوش ۔ حواس ۔ جس ۔ تعریف۔ ستائش ۔ سنتا ۔ سننے والا۔ بجھنہار۔ سمجھنے والا۔
ترجمہ معہ تشریح:
پائے الہٰی سچے ہیں اور دائمی ہیں سچا ہے اور دائمی ہے جو ان کو چھوتا ہے ۔ پرستش الہٰی سچی ہے اور دائمی خادم بھی اسکا سچا ہے اور دائمی ہے ۔ نام خدا کا سچا ہے اور دائمی ہے یاد کرنے والا بھی سچا ہے اور دائمی ہے ۔ دیدار بھی اسکا سچا ہے سچا ہے وہ بھی جو دیدار الہٰی کرتا ہے سچا آپ خدا ہے سچا جس نے عالم بنائیا اور سبنھالا ہے ۔ خدا ایک وصف ہے اور اوصاف وہ پیدا کرتا ہے ۔ کلام الہٰی سچا ہے ۔ سچا ہے جو کہتا ہے ۔ ہوش و حواس ہے اس کی سچی جو حمد خدا کی سنتا ہے جس نے سمجھ لیا ۔ جس نے پہچان لیا اس کے لئے سب سچا ہے ۔ اے نانک۔ سچا ہے خدا سچ ہی صدیوی ہے ۔

ستِ سروُپُ رِدےَ جِنِ مانِیا ॥
کرن کراۄن تِنِ موُلُ پچھانِیا ॥
جا کےَ رِدےَ بِس٘ۄاسُ پ٘ربھ آئِیا ॥
تتُ گِیانُ تِسُ منِ پ٘رگٹائِیا ॥
بھےَ تے نِربھءُ ہوءِ بسانا ॥
جِس تے اُپجِیا تِسُ ماہِ سمانا ॥
بستُ ماہِ لے بستُ گڈائیِ ॥
تا کءُ بھِنّن ن کہنا جائیِ ॥
بوُجھےَ بوُجھنہارُ بِبیک ॥
نارائِن مِلے نانک ایک ॥੨॥
لفظی معنی:
ست ۔ سچ ۔ سروپ ۔ شکل۔ روے ۔ دل ۔ ماتیا۔ ایمان لائیا ۔ کرن کراون۔ کرنے اور کرونے والا۔ مول۔ بنیاد۔ پچھانیا۔ پہچان کی ۔ بشواس ۔ یقین ۔ تت گیان۔ حیقت علم یا علمی حقیقت ۔ پر گئائیا ۔ ظاہر ہوا۔ بھے ۔ خوف۔ نر بھو۔ بیخوف۔ اپجیا۔ پیدا ہوا۔ سمانا ۔ مدغم۔ مجذوب۔ وست۔ اشیا۔ گڈائی ۔ ملائی۔ بھن۔ علیحدہ ۔ جدا۔ ببیک ۔ حقیقت و اصلیت سمجھنے کے سمجھ ۔ دور اندیش سمجھ ۔ نارائن۔ خدا (2)
ترجمہ معہ تشریح:
( ست) سچ کی شکل و صورت سمجھ کر جس انسان نے دل میں خدا بسائیا ایمان لائیا ہے ۔ اس نے کرنے اور کروانے کی حقیقت اور بنیاد کو خالق کو پہچانا ہے اپنائیا ہے ۔ جس کے دل میں الہٰی ہستی پر یقین ہو گیا اس کے دل میں علم حقیقی کا ظہور ہوگیا ۔ وہ دنیاوی خوف سے بیخوف ہوگیا ہے ۔ جس خدا سے ہوا تھا پیدا اسی میں الحاق ہو گیا ہے ۔ مجذوب ہوگیا ہے ۔ اگر ایک جنس میں اس جیسی ہم جنس ملا دی جائے ۔ اسمیں جدائی مٹ جاتی ہے ۔ دوری اور دوئی ختم ہوجاتی ہے ۔ انسان جس میں سوچ سمجھ اور بیداری ہے ۔ اے نانک۔ الہٰی ذات میں مل کر وہی ذات ہوئی ۔ دوئی اور دوری ختم ہوئی ۔ مگر اس خیال کوئی شاذ و نادر ہی سمجھتا ہے ۔ جس نے ہے پہچان حقیقت کی ۔

ٹھاکُر کا سیۄکُ آگِیاکاریِ ॥
ٹھاکُر کا سیۄکُ سدا پوُجاریِ ॥
ٹھاکُر کے سیۄک کےَ منِ پرتیِتِ ॥
ٹھاکُر کے سیۄک کیِ نِرمل ریِتِ ॥
ٹھاکُر کءُ سیۄکُ جانےَ سنّگِ ॥
پ٘ربھ کا سیۄکُ نام کےَ رنّگِ ॥
سیۄک کءُ پ٘ربھ پالنہارا ॥
سیۄک کیِ راکھےَ نِرنّکارا ॥
سو سیۄکُ جِسُ دئِیا پ٘ربھُ دھارےَ ॥
نانک سو سیۄکُ ساسِ ساسِ سمارےَ ॥੩॥
لفظی معنی:
ٹھاکر۔ آقا۔ سیوک ۔ خدمتگار ۔ آگیا کاری ۔ فرمانبرداری ۔ پجاری ۔ پرستش کار ۔ پرتیت ۔ یقین ۔ نرمل۔ پاک ۔ ریت ۔ طرز زندگی ۔ سنگ ۔ ساتھ ۔ نام کے رنگ۔ الہٰی عاشق ۔ خدا کا پیار پریمی ۔ پالنہار ۔ پرورش کرنے والا۔ راکھے ۔ مچاتا ہے ۔ نرنکار ۔ خدا۔ دیا ۔ مہربانی ۔د ھارے ۔ کرئے ۔ سمارے ۔ دلمیں بسائے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خادم خدا فرمانبردار ہوتا ہے ۔ خادم آقا ہمیشہ پر ستش کار کرتا ہے ۔ خادم خالق کےد ل میں یقین ہوتا ہے ۔ خادم خالق کی زندگی کا دستوار پاک ہوتا ہے ۔ خادم خدا خدا کو ہمیشہ ساتھ جانتا ہے ۔ خادم خدا عشق الہٰی میں محو رہتا ہے ۔ خدا اپنے خادم کی پرورش کرتاہے ۔ خدا اپنے خادم کی عزت کا محافظ ہے ۔ خادم خدا وہی ہے جس پر الہٰی رحمت ہے ۔ اے نانک وہ لمحہ ہر سانس یاد خدا میں بناتا ہے ۔

اپُنے جن کا پردا ڈھاکےَ ॥
اپنے سیۄک کیِ سرپر راکھےَ ॥
اپنے داس کءُ دےءِ ۄڈائیِ ॥
اپنے سیۄک کءُ نامُ جپائیِ ॥
اپنے سیۄک کیِ آپِ پتِ راکھےَ ॥
تا کیِ گتِ مِتِ کوءِ ن لاکھےَ ॥
پ٘ربھ کے سیۄک کءُ کو ن پہوُچےَ ॥
پ٘ربھ کے سیۄک اوُچ تے اوُچے ॥
جو پ٘ربھِ اپنیِ سیۄا لائِیا ॥
نانک سو سیۄکُ دہ دِسِ پ٘رگٹائِیا ॥੪॥
لفظی معنی:
جن۔ خدمتگار۔ پردہ دھاکے ۔ عزت بر قرار رکھتا ہے ۔ گناہوں کو در گذر کرتا ہے ۔ سر پر ۔ ضرور۔ راکھے ۔ بچاؤ۔ کرتا ہے ۔ حفاظت کرتا ہے ۔ داس۔ خدمتگار۔ غلام ۔ وڈائی ۔ وقار۔ عزت و حشمت۔ گت مت ۔ حالت کا اندازہ ۔ نہ لاکھے ۔ نہیں سمجھتا ۔ پربھ کے سیوک خدائی خدمتگار ۔ پہو پے ۔ برابر۔ وہ دس۔ ہر طرف پر گٹائیا ۔ شہرت پائی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا اپنے خادم کی پردہ پوشی کرتا ہے ۔ اور اپنے خادم کی عزت و آبرو کی حفاظت کرتا ہے ۔ اپنے خادم کو وقار اور عظمت کی بخشش کرتا ہے اورا لہٰی نام جیواتا ہے ۔ خدا اپنے خادم کو خود عزرت دیتا ہے ۔ اس کی شان و شوکت اور عظمت کون بتا سکتا ہے ۔ الہٰی خادم کے کون برابر ہوتا ہے ۔ خادم خدا اونچےسے اونچا ہے ۔ جس سے خدمت خدا اپنی کرواتا ہے ۔ اے نانک۔ وہ خادم ہر جگہ شہرت پاتا ہے ۔

نیِکیِ کیِریِ مہِ کل راکھےَ ॥
بھسم کرےَ لسکر کوٹِ لاکھےَ ॥
جِس کا ساسُ ن کاڈھت آپِ ॥
تا کءُ راکھت دے کرِ ہاتھ ॥
مانس جتن کرت بہُ بھاتِ ॥
تِس کے کرتب بِرتھے جاتِ ॥
مارےَ ن راکھےَ اۄرُ ن کوءِ ॥
سرب جیِیا کا راکھا سوءِ ॥
کاہے سوچ کرہِ رے پ٘رانھیِ ॥
جپِ نانک پ٘ربھ الکھ ۄِڈانھیِ ॥੫॥
لفظی معنی:
نیکی ۔ سنھی ۔ کیری ۔ چیونٹی ۔ کل۔ طاقت۔ قوت۔ بھم ۔ راکہہ ۔ سوآہ ۔ کوٹ۔ کروڑ ۔ تاکوؤ۔ اسے ۔ راکھت ۔ بچاتا ہے ۔ جتن ۔ کوشش۔ نرود۔ بہو ۔ بھات ۔ بہت سے طریقوں سے ۔ کرتب۔ کام ۔ برتھے ۔ بیفائدہ ۔ اور ۔ دوسرا ۔ سرب جیا ۔ تمام جانداروں کا ۔ راکھا سوئے ۔ بچانے وہی ہے ۔ سوچ۔ فکر مند۔ پرانی ۔ انسان ۔ ایکہہ ۔ جو بیان نہ ہو سکے ۔ ڈانی ۔ حیران کن ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ننھی سی چیونٹی کو بھی خدا قوت عنایت کرتا ہے ۔ لاکھوں اور کروڑوں کو وہ پل بھر میں خاک ملاتا ہے ۔ جسکو نہ مارنا چاہے خدا اپنی امداد سے اسے بچاتا ہے ۔ انسان طرح طرح کی کوشش کرتا ہے ۔ مگر سارے کام اس کے جو کرتا ہے ۔ بیکار اور بیفائدہ ہوتے ہیں۔ مارنے والا اور بچانے والا نہیں کو دوسرا تمام۔ جانداروں کو بچانے والا ہے ۔ وہی کیوں فکر مند ہے انسان ۔ اے نانک۔ اس حیران کن بیان سے باہر بلند عظمت خدا کو یاد کر ۔

بارنّ بار بار پ٘ربھُ جپیِئےَ ॥
پیِ انّم٘رِتُ اِہُ منُ تنُ دھ٘رپیِئےَ ॥
نام رتنُ جِنِ گُرمُکھِ پائِیا ॥
تِسُ کِچھُ اۄرُ ناہیِ د٘رِسٹائِیا ॥
نامُ دھنُ نامو روُپُ رنّگُ ॥
نامو سُکھُ ہرِ نام کا سنّگُ ॥
نام رسِ جو جن ت٘رِپتانے ॥
من تن نامہِ نامِ سمانے ॥
اوُٹھت بیَٹھت سوۄت نام ॥
کہُ نانک جن کےَ سد کام ॥੬॥
لفظی معنی:
بار نبار ۔ بار بار ۔ انمرت۔ آبحیات۔ زندگی بخشنے والا پانی ۔ دھرییئے ۔ سر کئے ۔ من تن ۔ دل و جان۔ گورمکھ ۔ مرید مرشد۔ درسٹائیا۔ نظر۔ دیکھا۔ دھن۔ سرمایہ ۔ دولت۔ روپ ۔ رنگ ۔ شکل وصورت ۔ سنگ۔ ساتھ ۔ تر پتانے ۔ تمنا پوری ہوئی ۔ ارس۔ لطف۔ مزہ ۔ سمانے ۔ جذب ہوگئے ۔ سووت ۔ سوتے وقت۔
ترجمہ معہ تشریح:
بار بار یاد کر خدا کو آب حیات ہے یہ ۔ دل و جان آب حیات پینے سے سیر ہوجاتا ہے ۔ صبر پاتا ہے ۔ جس نے مرید مرشد سے نام کا ہیرا پائیا ہے ۔ اسے اس عالم تب دوسرا نظر کب آئیا ہے ۔ نام ہی اس کی شکل وصورت نام ہی ۔ اسکا سرمایہ ہے ۔ نام ہی اس کے لئے راحت نام الہٰی ساتھی ۔ جنہوں نے نام کی لذت پائی ہے ۔ ان کی تمنا ہوئی ہے پوری ۔ دل وجان نام میں مجذوب ہوئے ۔ا یسے ہی اُٹھتے اور بیٹھتے نام خدا کا لیتے ہیں۔ اے نانک۔ بتادے خادمان خدا کا یہی کام ہے ۔

بولہُ جسُ جِہبا دِنُ راتِ ॥
پ٘ربھِ اپنےَ جن کیِنیِ داتِ ॥
کرہِ بھگتِ آتم کےَ چاءِ ॥
پ٘ربھ اپنے سِءُ رہہِ سماءِ ॥
جو ہویا ہوۄت سو جانےَ ॥
پ٘ربھ اپنے کا ہُکمُ پچھانےَ ॥
تِس کیِ مہِما کئُن بکھانءُ ॥
تِس کا گُنُ کہِ ایک ن جانءُ ॥
آٹھ پہر پ٘ربھ بسہِ ہجوُرے ॥
کہُ نانک سیئیِ جن پوُرے ॥੭॥
لفظی معنی:
جیہا ۔ زبان۔ دن رات۔ روز و شب۔ دات ۔ بخشش۔ جس ۔ تعریف۔ بھگت۔ عبادت ۔ آتم۔ روح۔ چائے ۔ خوشی۔ سمائے ۔ مجذوب ۔ مدغم۔ محو۔ جو ہوا۔ جو ہوا ہے ۔ ہووت ہوگا ۔ مہما ۔ عظمت ۔ تعریف ۔ وکھانیو۔ بیان کر سکتا ہے ۔ حضورے ۔ حاضر ناظر ۔ پورے ۔ کامل ۔
ترجمہ معہ تشریح:
روز و شب زبان سے اس کی تعریف کرؤ ۔ خدا نے اپنے خادم کو یہ نعمت بخشی ہے ۔ جو شوق اور د و جان سے خدا سے عشق لگاتے ہیں۔ خدا میں وہ مجذوب ہوجاتے ہین۔ ایسے خادم جو ہوا ہے اور ہونا ہے جو جانتے ہیں۔ فرمان الہٰی پہچانتے ہیں۔ تعریف ان کی کون بیان کرے وہ تعریفوں سے بالا ہیں۔ ایسے خادم کی عظمت میں کیا بیان کروں ۔ اسکا وصف بھی بیان گرنی سے قاصر ہوں۔ جانتا نہیں۔ جن کے دلمیں روز وشب الہٰی حضوری ہے ۔ اے نانک وہ کامل ہیں اور پورے ہیں۔

من میرے تِن کیِ اوٹ لیہِ ॥
منُ تنُ اپنا تِن جن دیہِ ॥
جِنِ جنِ اپنا پ٘ربھوُ پچھاتا ॥
سو جنُ سرب تھوک کا داتا ॥
تِس کیِ سرنِ سرب سُکھ پاۄہِ ॥
تِس کےَ درسِ سبھ پاپ مِٹاۄہِ ॥
اۄر سِیانپ سگلیِ چھاڈُ ॥
تِسُ جن کیِ توُ سیۄا لاگُ ॥
آۄنُ جانُ ن ہوۄیِ تیرا ॥
نانک تِسُ جن کے پوُجہُ سد پیَرا ॥੮॥੧੭॥
لفظی معنی:
تن ۔ انکی ۔ اوٹ۔ آسرا ۔ سرب۔ سارے ۔ تھوک ۔ سارے خزانے ۔ تمام نعمتیں ۔ داتا۔ دینے و الا۔ سخاوت کرنے والا سخی ۔ سرن ۔ سایہ ۔ پناہ ۔ سر ب سکھ ۔ ہطر ح کا آرام ۔ درس۔ دیدار۔ پاپ۔ گناہ ۔ سیانپ ۔ دانشمندی ۔ سگلی ۔ ساری ۔ چھاؤ۔ ترک کر ۔ سیوا۔ خدمت۔ آون جان ۔ تناسخ ۔ پوجہو ۔ پرستش۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دل میرے ایسے کامل انسانوں کے سایہ میں راہ اور دل و جان بھینٹ کردے ۔ جس نے خدا کی کرلی پہچان سمجھ لی اس کی شان فیاض ہے وہ اور سب نعمتیں دینے کے لائق ہے ۔ وہ اس کے سایہ میں تمام آرام پاتا ہے انسان ۔ دیدار سے اس انسان سے سارے گناہ مٹ جاتے ہیں۔ اے انسان تو تمام دنیاوی دانشمندیاں چھوڑ کر خدمت کر اس انسان کی تیرا تناسخ مٹ جائیگا۔ اے نانک۔ ایسے انسانوں کے پاؤں کرؤ پرستش۔

سلوکُ ॥
ستِ پُرکھُ جِنِ جانِیا ستِگُرُ تِس کا ناءُ ॥
تِس کےَ سنّگِ سِکھُ اُدھرےَ نانک ہرِ گُن گاءُ ॥੧॥
لفظی معنی:
ست۔ سچا۔ صدیوی ۔ پرکہ ۔ انسان ۔ جانیا۔ پہچان کی ۔ سمجھ لیا ۔ ستگر۔ سچا مرشد۔ تس۔ اس ۔ ناؤں۔ نام۔ سنگ ۔ صحبت ۔ سیکھ ۔ مرید ۔ ودیار تھی ۔ دھرے ۔ بچتا ہے ۔ ہر گن۔ الہٰی توصف ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس نے سچے پاک خدا کو سمجھ لیا پہچان لیا ہے ۔(ستگر) سچا مرشد اسکا نام ہے ۔ اسکی صحبت و قربت سے طالب علم ر وحانیت کی بدکاریوں سے بچ جاتا ہے اے نانک الہٰی صفت صلاح کر ۔

اسٹپدیِ ॥
ستِگُرُ سِکھ کیِ کرےَ پ٘رتِپال ॥
سیۄک کءُ گُرُ سدا دئِیال ॥
سِکھ کیِ گُرُ دُرمتِ ملُ ہِرےَ ॥
گُر بچنیِ ہرِ نامُ اُچرےَ ॥
ستِگُرُ سِکھ کے بنّدھن کاٹےَ ॥
گُر کا سِکھُ بِکار تے ہاٹےَ ॥
ستِگُرُ سِکھ کءُ نام دھنُ دےءِ ॥
گُر کا سِکھُ ۄڈبھاگیِ ہے ॥
ستِگُرُ سِکھ کا ہلتُ پلتُ سۄارےَ ॥
نانک ستِگُرُ سِکھ کءُ جیِء نالِ سمارےَ ॥੧॥
لفظی معنی:
پرتپا ل ۔ پرورش۔ دیال۔ مہربان۔ درمت ۔ بد عقلی ۔ ہرے ۔ مٹاتا ہے ۔ گربچنی ۔ کلام مرشدی ۔ اچرے ۔ بیا ن کرتا ہے ۔ بندھن ۔ غلامی ۔ وکار ۔ بدکار ۔ نام دھن۔ الہٰی نام کا سرمایہ ۔ وڈبھاگی ۔ خوش قسمت ۔ ہلت۔ یہاں۔ پلت۔ اگلا جہاں ۔ ہر دو علام ۔ حال و مستقبل ۔ جیئہ نال۔ دل وجان سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچا مرشد اپنے طالب علم کی پرورش کر تا ہے اپنے خادم پر ہمیشہ مہربانی کرتا ہے ۔ سچا مرشد اپنے طالب علم کی بد کاریوں کی نا پاکیزگی دور کرتا ہے ۔ کیونکہ واعظ مرشد سے وہ خدا کو یاد کرتا ہے ۔ سچا مرشد اپنے شاگرد کی ذہی غلامی کی بندشیں دور کر دیتا ہے جس سے شاگرد بدکاری چھوڑ دیتا ہے ۔
سچا مرشد اپنے شاگرد کو الہٰی نام کی دولت سے سرفراز کرتا ہے ۔ جس سے سچے مرشد کا سکہہ بلند قسمت ہوجاتا ہے ۔
سچا مرشد اپنے شاگر د کا ہر دو جہاں کا مستقبل سنوار دیتا ہے ۔ نیکو کار بنا دیتا ہے ۔ اے نانک سچا مرشد اپنے شاگرد کو دل وجان سے اس کی سنبھال کرتا ہے ۔

گُر کےَ گ٘رِہِ سیۄکُ جو رہےَ ॥
گُر کیِ آگِیا من مہِ سہےَ ॥
آپس کءُ کرِ کچھُ ن جناۄےَ ॥
ہرِ ہرِ نامُ رِدےَ سد دھِیاۄےَ ॥
منُ بیچےَ ستِگُر کےَ پاسِ ॥
تِسُ سیۄک کے کارج راسِ ॥
سیۄا کرت ہوءِ نِہکامیِ ॥
تِس کءُ ہوت پراپتِ سُیامیِ ॥
اپنیِ ک٘رِپا جِسُ آپِ کرےءِ ॥
نانک سو سیۄکُ گُر کیِ متِ لےءِ ॥੨॥
لفظی معنی:
گریہہ ۔ گھر ۔ آگیا۔ فرمان۔ حکم۔ من میہہ سہے ۔ د ل سے برداشت کرئے ۔ جناوے ۔ ظاہر نہ کرئے ۔ ردھے ۔ دلمیں۔ راس۔ کامیاب۔ درست۔ ۔ نہکامی ۔ بلا خواہش عوضانہ ۔ سوآمی ۔ آقا۔ مالک ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو شاگرد برائے تحصیل علم مرشد کے گھر پر رہتا ہے اسے چاہیے مرشد کا حکم دل وجان سے مانے ۔ اسے اپنے آپ کی برتی ظاہر نہیں کرنی چاہیے ۔ اور خدا کو ہمیشہ یاد کرتا ہے ۔ اور سچے مرشد کے مطابق اپنے من کو بنائے ۔ ایسے خادم شاگرد کے کام درست ہوجاتے ہیں۔ بلا کسی عوضانے کی خواہش کے خدمت کرئے ایسے خدمتگار کا ملاپ آقا سے ہوجاتا ہے ۔ جس پر خدا کی رحمت ہوگی اور خدا اپنا رحم فرمائیگا۔ اے نانک۔ اپنے مرشد سے شاگرد و خادم خود ہی ہدایتیں پائیگا۔

بیِس بِسۄے گُر کا منُ مانےَ ॥
سو سیۄکُ پرمیسرُ کیِ گتِ جانےَ ॥
سو ستِگُرُ جِسُ رِدےَ ہرِ ناءُ ॥
انِک بار گُر کءُ بلِ جاءُ ॥
سرب نِدھان جیِء کا داتا ॥
آٹھ پہر پارب٘رہم رنّگِ راتا ॥
ب٘رہم مہِ جنُ جن مہِ پارب٘رہمُ ॥
ایکہِ آپِ نہیِ کچھُ بھرمُ ॥
سہس سِیانپ لئِیا ن جائیِئےَ ॥
نانک ایَسا گُرُ بڈبھاگیِ پائیِئےَ ॥੩॥
لفظی معنی:
بیس بسوے ۔ مکمل طور پر ۔ مانے ۔سمجھے ۔ گت۔ حالت۔ ردھے ۔د لمیں۔ سر ب ندھان۔ سارے خزانے ۔ جئہ ۔ جانداروں ۔ بابرہم۔ خدا۔ رنگ راتا۔ پیار محبت میں محو ومجذوب۔ برہم میہہ جن ۔ جن میہہ پار برہم۔ خدا میں خادم ا ور خادم میں خدا ۔ ایکہہ آپ ۔ واحد ہے ۔ نہیں کچھ بھرم۔۔ اسمیں کوئی شب و شبہ نہیں۔ کیا نہ جائے ۔ پائیا نہیں جاسکتا ۔ گر مرشد۔ وڈبھاگی ۔ بلند قسمت۔
ترجمہ معہ تشریح:
جسے مکمل طور پر سچا مرشد اپنا اگر د خادم مانے گا۔ اس خادم کو حالات الہٰی سے آگاہی پائے گا۔ سچا مرشد وہی ہے جس کے دلمیں نام خدا کا بستا ہے ۔ بار بار ایسے مرشد پر قربان جاؤں جان بھی قربان ہے ۔ سارے مال خزانے لوگوں کو بخشش کرتا ہے ۔ روز و شب یاد الہٰی میں مست محو ومجذوب خوشی مناتا ہے ۔ خادم خدا میں مجذوب ہوا رہتا ہے ۔ اور خدا خادم میں بستا ہے ۔ واحد ہے ۔ اک ذات خدا کی اس میں کوئی شک نہیں لاکھوں ہو دانشمندیاں اگر پا اسے سکتے نہیں ۔ اے نانک ایسا مرشد بلند قسمت سے ہی ملتا ہے ۔

سپھل درسنُ پیکھت پُنیِت ॥
پرست چرن گتِ نِرمل ریِتِ ॥
بھیٹت سنّگِ رام گُن رۄے ॥
پارب٘رہم کیِ درگہ گۄے ॥
سُنِ کرِ بچن کرن آگھانے ॥
منِ سنّتوکھُ آتم پتیِیانے ॥
پوُرا گُرُ اکھ٘ز٘زئو جا کا منّت٘ر ॥
انّم٘رِت د٘رِسٹِ پیکھےَ ہوءِ سنّت ॥
گُنھ بِئنّت کیِمتِ نہیِ پاءِ ॥
نانک جِسُ بھاۄےَ تِسُ لۓ مِلاءِ ॥੪॥
لفظی معنی:
سپھل۔ برآور ۔ پھل دینے والا۔ درشن۔ دیدار ۔ پیکھت ۔ دیکھتے ہی ۔ پنت۔ نہایت پاک۔ پر ست ۔ چھونے سے ۔ چرن ۔ پاؤں۔ گت۔ حالت۔ نرمل۔ پاک ۔ ریت ۔ رسم و رواج ۔ اخلاق۔ درگیہہ ۔ بارگاہ ۔ عدالت دیار۔ گوے ۔ رسائی ۔ بچن۔ کلام۔ سبد۔ آگھانے ۔ سیر ہوجاتے ہیں۔ سنتوکہہ ۔ صبر۔ آتم۔ روح۔ ذہن۔ پتیانے ۔ یقین آجاتا ہے ۔ پور گر۔ کامل مرشد۔ اکھیو ۔ لافناہ۔ منتر۔ واعظ ۔ نصیحت۔ سبق۔ انمرت درشٹ۔ آبحیات ۔ بھری نگا ہیں۔ پیکھے ۔ دیکھنے سے ۔ سنت ۔ خدا رسیدہ پاکدامن ۔ عارف۔ جس بھاوے جسے ۔ چاہتا ۔ خدا
ترجمہ معہ تشریح:
کامیاب دیدار ہے ایسا دیکھتے ہی دل پاک ہوجاتا ہے ۔ پاؤں کو اس کے چھونے سے پاک اخلاق ہوجاتا ہے ۔ صحبت و قرتب میں اس کی وصف الہٰی کہتا ہے ۔ بارگاہ خڈا کا ر ہ رواں ہوجاتا ہے ۔ کلام الہٰی سننے سے مرشد کام بھی صابر ہوجاتے ۔من صابر روح با وثوق ب ایقین ہوجاتی ہے ۔ واعظ کامل مرشد کی لافنای ہے مٹتی نہیں۔ لگائیں آبحیات برساتی ہیں دیدار سے انسان عارف ہوجاتا ہے ۔ بیشمار اوصاف ہیں اس میں کوئی بھی پا سکتا نہیں۔ اے نانک۔ جسے چاہتا ہے ساتھ ملاتا ہے ۔

جِہبا ایک اُستتِ انیک ॥
ستِ پُرکھ پوُرن بِبیک ॥
کاہوُ بول ن پہُچت پ٘رانیِ ॥
اگم اگوچر پ٘ربھ نِربانیِ ॥
نِراہار نِرۄیَر سُکھدائیِ ॥
تا کیِ کیِمتِ کِنےَ ن پائیِ ॥
انِک بھگت بنّدن نِت کرہِ ॥
چرن کمل ہِردےَ سِمرہِ ॥
سد بلِہاریِ ستِگُر اپنے ॥
نانک جِسُ پ٘رسادِ ایَسا پ٘ربھُ جپنے ॥੫॥
لفظی معنی:
استت۔ تعریف ۔ ستائش ۔ ست پرکہہ۔ سچا۔ انسان ۔ سچی ہستی ۔ پورن ۔ کامل۔ ببیک۔ با سمجھ ۔ با عقل و شعور ۔ کاہو۔ کبھی ۔ بول۔ بات چیت۔ اگرچر۔ نا قابل بیا ق ۔ اگم۔ انسانی رسائی سے باہر ۔ نربانی ۔ بلا خواہش۔ نراہار۔ بلا کھانا۔ نرویر ۔ بلا دشمن۔ سکھدائی ۔ سکھ دینے والا۔ انک۔ بندھن۔ بیشمارگذارشیں۔ نت ۔ ہر روز۔ چرن کمل۔ پاک پاوں۔ جس پر ساد۔ جس کی رحمت سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
زبان ایک ہے شمار نہیں اوصافوں کا سچی ہستی ہے اس کی مکمل سوچ سمجھ کا مالک ہے ۔ کوئی االفاظ نہیں کلام نہیں ہیں۔ جس سے تعریف کیجائے ۔ انسانی رسائی سے بلند بیان سے باہر بلا خواہش خدا نہ کھاتا ہے نہ پیتا ہے کسی سے دشمنی نہیں سکہدینے والا ہے ۔ ایسے خدا کی کوئی قدرو قیمت پا نہیں سکتا۔ بیشمار عاشقان الہٰی ہر روز ا س سے گذارشیں کرتے یہں۔ پاک پاوں کی میں دل سے دھیان لگاتے ہیں۔ سو بار قربان ہوں اپنے سچے مرشد پر اے نانک جس کی رحمت سے نام خدا کا لیتے ہیں۔

اِہُ ہرِ رسُ پاۄےَ جنُ کوءِ ॥
انّم٘رِتُ پیِۄےَ امرُ سو ہوءِ ॥
اُسُ پُرکھ کا ناہیِ کدے بِناس ॥
جا کےَ منِ پ٘رگٹے گُنتاس ॥
آٹھ پہر ہرِ کا نامُ لےءِ ॥
سچُ اُپدیسُ سیۄک کءُ دےءِ ॥
موہ مائِیا کےَ سنّگِ ن لیپُ ॥
من مہِ راکھےَ ہرِ ہرِ ایکُ ॥
انّدھکار دیِپک پرگاسے ॥
نانک بھرم موہ دُکھ تہ تے ناسے ॥੬॥
لفظی معنی:
ہر رس۔ الہٰی لطف ۔ امر ۔ دائمی ۔ صدیوی وناس۔ موت۔ پر گٹے ۔ ظاہر ہوئے ۔ گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ ۔ سچ اپدیس۔ سچا سبق ۔ سچی نصیحت ۔ موہ ۔ محبت۔ مائیا۔ دنیاوی دولت ۔ ۔ سنگ۔ ۔ ساتھ۔ لیپ ۔ پگاؤ۔ رشتہ ۔ تعلق ۔ اندھکار۔ سخت اندھیرے میں۔ دیپک ۔ دیا۔ چراغ۔ پر گاس۔ روشنی کرتا ہے ۔ بھرم۔ شک۔ موہ ۔ محبت۔ دکہہ۔ عذاب ۔ ناسے ۔ دور ہوتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی عشق کا لطف کوئی ہی اٹھاتا ہے جو اٹھاتا ہے اس آبحیات کے پینے سے دائمی ہوجاتا ہے ایسے انسان کو موت کبھی ستائی نہیں جس کے دل میں ( روشن ) روشنی ہواوصاف کے خزانوں کی روز و شب جو دل کی گہرایوں سے نام خدا کا لیتا ہے ۔ سچ سچا سبق و واعظ جو شاگر دو خآدم کو دیتا ہے ۔ دنیایو دولت سے اسکا پیا رنہ ہو نہ دل للچاتا ہو ۔ واح خدا سے پیار ہو اسکا دلمیں اس کی یاد بھی ہو ۔ جیسے دور ہوجاتاہے اندھیرا چراغ روشن ہو جایئے ۔ اے نانک۔ ایسے ہی محبت ۔ شک عذاب مٹ جاتے ہیں ۔ ۔

تپتِ ماہِ ٹھاڈھِ ۄرتائیِ ॥
اندُ بھئِیا دُکھ ناٹھے بھائیِ ॥
جنم مرن کے مِٹے انّدیسے ॥
سادھوُ کے پوُرن اُپدیسے ॥
بھءُ چوُکا نِربھءُ ہوءِ بسے ॥
سگل بِیادھِ من تے کھےَ نسے ॥
جِس کا سا تِنِ کِرپا دھاریِ ॥
سادھسنّگِ جپِ نامُ مُراریِ ॥
تھِتِ پائیِ چوُکے بھ٘رم گۄن ॥
سُنِ نانک ہرِ ہرِ جسُ س٘رۄن ॥੭॥
لفظی معنی:
تپت ۔ تپش۔ گرمی ۔ ٹھاؤ۔ ٹھنڈک۔ انند۔ سکون۔ انیسے ۔ خوف۔ پون۔ اپدیسے ۔ مکمل ۔ سبق ۔ واعظ یا نصیحت۔ بھو۔ خوف۔ چوکا ۔ ختم ہوا۔ نر بھو۔ بیخوف۔ بیادھ ۔ بیماریاں۔ کھے ۔ مٹے ۔ کر پادھاری ۔ مہربانی فرمائی ۔ سادھ۔ وہ انسان جس نے مکمل طور پر اندرونی و بیرونی ذہنی و جسمانی پاکیزگی حاسل کرلی ہے ۔ سنگ۔ صحبت و قربت ۔ مراری ۔ خدا۔ تھت۔ سکون۔ بھرم۔ شکوک ۔ گون۔ تناسخ۔ ہر جس ۔ الہٰی حمدودعا۔
ترجمہ معہ تشریح:
دلمیں ہوتیں جب بدیوں کی تب بھی تھنڈک پہنچاتا ہے سکون ہوا عذاب مٹے سارا دکھ درد کا فور ہوا۔ عارف پاکدامن کے کامل سبق واعظ جو کہتا ہے ۔ موت کا خوف تب دلمیں کیوں رہتاہے ۔ خوف مٹا بیخوف ہوئے دل کے شکل مٹ گئے ۔ تمام مٹیں بیماریاں دل کی بے فکر ہوئے ۔ جس کی تھے ملکیت میں اس نے رحمت فمرائی ہے ۔ صحبت و قربت میں عارف کی خدا کا نام لیا اے نانک ۔ تعریف خدا کی کانوں سے سنکر سکون ملا مٹے وہم گمان تناسخ گیا۔

نِرگُنُ آپِ سرگُنُ بھیِ اوہیِ ॥
کلا دھارِ جِنِ سگلیِ موہیِ ॥
اپنے چرِت پ٘ربھِ آپِ بناۓ ॥
اپُنیِ کیِمتِ آپے پاۓ ॥
ہرِ بِنُ دوُجا ناہیِ کوءِ ॥
سرب نِرنّترِ ایکو سوءِ ॥
اوتِ پوتِ رۄِیا روُپ رنّگ ॥
بھۓ پ٘رگاس سادھ کےَ سنّگ ॥
رچِ رچنا اپنیِ کل دھاریِ ॥
انِک بار نانک بلِہاریِ ॥੮॥੧੮॥
لفظی معنی:
دنیاوی دولت کے اوساف سے پاک ہوتے ہوئے ۔ سب وصفؤں والا ہے ۔ نرگن۔ بلا اوصاف ۔ سرگن۔ سارے اوصاف۔ کلا دھار۔ اپنی قوت پیدا کرکے ۔ سگلی ۔ ساری ۔ موہی ۔ محبت کی گرفت میں لائی ۔ چرت۔ کھیل۔ سرب نرئتر۔ سب کے ذہن میں۔ اوت پوت۔ تانے اور پیٹے کی مانند۔ پر گاس۔ روشن ۔ ظہور۔
ترجہ
سب وصفوں کا مالک پاک خدا بلا وصف دنیاوی ہے ۔ اس کی قدرت اور طاقت نے سب کو حیرت میں ڈالا ہے اور گرفتار ہیں سب محبت اپنے کھیل سب آپ بنائے خدا نے اور خود اپنی عظمت کی قدر وقیمت پاا ہے ۔ نہیں ثانی کوئی خدا کا واحد ہے لاثانی ہے ۔ نور اسی کا سب کے اندر گو واحد وہ ہے ۔ شکیلں سب میں اسی نے رنگ بھرا ہے ۔ تانے اور پیٹے کی مانند سارے عالم میں بستا ہے ۔
صحبت و قبربت عارف پاکدامن کی نور اسکا ظہور میں آا ہے ۔ قائنات قدرت پیدا کرکے اسمیں اپنی قوت ابھاری ہے ۔ اے نانک۔ ایسے خدا پر بار ار بلہاری ہے ۔
سلوکُ ॥
ساتھِ ن چالےَ بِنُ بھجن بِکھِیا سگلیِ چھارُ ॥
ہرِ ہرِ نامُ کماۄنا نانک اِہُ دھنُ سارُ ॥੧॥
لفظی معنی:
بن بھجن۔ بغیر عبادت ا لہٰی ۔ وکھیا۔ دنیاوی دولت ۔ چھار۔ راکھ ۔ سوآہ ۔ سار۔ مول۔ بنیاد۔
ترجمہ معہ تشریح:
بغیر عبادت سوچ اے انسان ساتھ ن ترے کچھ جائیگا۔ یہ دنیاوی دولت ساری ہے ایک راکھ برابر۔ یاد الہٰی کار انسان کی ایک روحانی دولت کی بنیاد ہے اے نانک۔

اسٹپدیِ ॥
سنّت جنا مِلِ کرہُ بیِچارُ ॥
ایکُ سِمرِ نام آدھارُ ॥
اۄرِ اُپاۄ سبھِ میِت بِسارہُ ॥
چرن کمل رِد مہِ اُرِ دھارہُ ॥
کرن کارن سو پ٘ربھُ سمرتھُ ॥
د٘رِڑُ کرِ گہہُ نامُ ہرِ ۄتھُ ॥
اِہُ دھنُ سنّچہُ ہوۄتُ بھگۄنّت ॥
سنّت جنا کا نِرمل منّت ॥
ایک آس راکھہُ من ماہِ ॥
سرب روگ نانک مِٹِ جاہِ ॥੧॥
لفظی معنی:
آدھار ۔ آسرا۔ اور ۔ دوسرے ۔ اپاو ۔ کوشش۔ سب ۔ ساری ۔ میت۔ دوست۔ دسارہو ۔ پھیلاؤ ۔ چرن کمل۔ پھول کی مانند پاؤں ۔ رد ماہے ۔ اردھارو۔ دلمیں بساؤ۔ کارن ۔ سبب۔ سمرتھ ۔ لائق باتوفیق ۔ درڑ۔ پختہ ۔ گہو ۔ پکڑو۔ وکتھ ۔ اشیا۔ سنچہو ۔ اکھٹا کرؤ۔ بھگونت ۔ خوش قسمت ۔ نرمل۔ پاک۔ منت۔ سبق۔ آس۔ امید۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ حصہ درج نہیں ہے

جِسُ دھن کءُ چارِ کُنّٹ اُٹھِ دھاۄہِ ॥
سو دھنُ ہرِ سیۄا تے پاۄہِ ॥
جِسُ سُکھ کءُ نِت باچھہِ میِت ॥
سو سُکھُ سادھوُ سنّگِ پریِتِ ॥
جِسُ سوبھا کءُ کرہِ بھلیِ کرنیِ ॥
سا سوبھا بھجُ ہرِ کیِ سرنیِ ॥
انِک اُپاۄیِ روگُ ن جاءِ ॥
روگُ مِٹےَ ہرِ اۄکھدھُ لاءِ ॥
سرب نِدھان مہِ ہرِ نامُ نِدھانُ ॥
جپِ نانک درگہِ پرۄانُ ॥੨॥
لفظی معنی:
دھن۔ سرمایہ ۔ چارکنٹ ۔ چاروں طرف۔ دھاویہہ ۔ دور دہوپ کرتا ہے ۔ ہر سیوا ۔ خدمت خدا۔ باچھیہہ ۔ چاہتا ہے ۔ میت۔ دوست۔ سادہوسنگ ۔ صحبت پاکدامن ۔ عارف میں۔ پریت۔ پیار۔ سوبھا۔ شہرت۔ بھلی کرنی ۔ نیک کام۔ بھج ہر کی سرنی ۔ سایہ الہٰی میں ملتی ہے ۔ انک ۔ بیشمار۔ اپاؤ۔ کوشش۔ جہدو ترود۔ روگ۔ بیماری ۔ اوکھد۔ دوائی ۔ ندھان۔ خزانہ ۔ درگیہہ ۔ دربار الہٰی ۔ پروان۔ قبول۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسا ن جس دولت کے لئے چاروں طرف دوڑ دھو پ کرتا ہے ۔ وہ سرمایہ خدمت خدا سے ملتا ہے ۔ جس آرام و آسائش کی ہر ورو ز خواش کرتا ہے ۔ وہ آرام و آسائش صحبت و قربت اور عارف کے پریم پیار سے ملتا ہے ۔ جس نیک شہرت کے لئے نیک کام کرتا ہے وہ پاک شہرت الہٰی یاد اور پناہ سے ملتا ہے ۔ کتنی ہی کوشش کیون نہ کیائے ۔ بیماری نہ جائیگی ۔ بیماری دوائی نام الہٰی سے مٹ جاتی ہے ۔ تمام دنیاوی خزانوں سے اعلے الہٰی نام کا خزانہ ہے ۔ اے نانک۔ الہٰی یاد سے دربار الہیی میں قبولیت ملتی ہے ۔

منُ پربودھہُ ہرِ کےَ ناءِ ॥
دہ دِسِ دھاۄت آۄےَ ٹھاءِ ॥
تا کءُ بِگھنُ ن لاگےَ کوءِ ॥
جا کےَ رِدےَ بسےَ ہرِ سوءِ ॥
کلِ تاتیِ ٹھاںڈھا ہرِ ناءُ ॥
سِمرِ سِمرِ سدا سُکھ پاءُ ॥
بھءُ بِنسےَ پوُرن ہوءِ آس ॥
بھگتِ بھاءِ آتم پرگاس ॥
تِتُ گھرِ جاءِ بسےَ ابِناسیِ ॥
کہُ نانک کاٹیِ جم پھاسیِ ॥੩॥
لفظی معن
من پر بودہو ۔ من کو بیدار کرؤ۔ ۔ ہر کے نائے ۔ الہٰی نام سے ۔ سچ ۔ حق و حقیقت اپنا کر۔ دھاوت بھٹتکتا ۔ ٹھاے ۔ ٹھکانے ۔ وگھن۔ روک ۔ روے ۔ دلمیں۔ کل تاتی ۔ زمانہ آگ کی مانند گرم ہے ۔ بھو ونسے ۔ خوف مٹتا ہے ۔ آس۔ امید۔ آتم پر گاس۔ روح پر نور ہوتی ہے ۔ ذہن ذہہن ہوجاتا ہے ۔ تت گھر۔ اس گھر۔ اوناسی ۔ لافناہ ۔ کائی جم پھاسی ۔ روحانی موت کا پھندہ کٹ گیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
من کو اپنے بیدار کرؤ نام الہٰی سے ۔ تاکہ بھٹکتا من تسکین بستا ہے خدا اس کے راستے کی روکیں۔ دور ہوجاتی ہے ۔ زمانے کی تپش و گرمی نام الہٰی سے ٹھنڈک اور سکون پاتی ہے ۔ اور ریاض الہٰی سے سکھ ملتاہے ۔ خوف مٹتا ہے امیدیں پوری ہوتی ہین۔ عشق الہٰی سے اور ریاض الہٰی سے روح نورانی ہوتی ہے ذہن ذہین ہو جاتا ہے ۔ انسان اس لافانی حالت میں لا فانی گھر جابستا ہے ۔ اے نانک۔ تو بتادے روحانی موت کا پھندہ کٹ جاتاہے ۔

تتُ بیِچارُ کہےَ جنُ ساچا ॥
جنمِ مرےَ سو کاچو کاچا ॥
آۄا گۄنُ مِٹےَ پ٘ربھ سیۄ ॥
آپُ تِیاگِ سرنِ گُردیۄ ॥
اِءُ رتن جنم کا ہوءِ اُدھارُ ॥
ہرِ ہرِ سِمرِ پ٘ران آدھارُ ॥
انِک اُپاۄ ن چھوُٹنہارے ॥
سِنّم٘رِتِ ساست بید بیِچارے ॥
ہرِ کیِ بھگتِ کرہُ منُ لاءِ ॥
منِ بنّچھت نانک پھل پاءِ ॥੪॥
لفظی معنی
تت۔ اصلیت ۔ حقیقت۔ ویچار۔ سوچ سمجھ کر ۔ جن۔ انسان ۔ ساچا۔ جو سچا ہے ۔ جنم مرے ۔ جوپیدا ہوکر بیفائدہ زندگی گذار کر قوت ہوجاتا ہے ۔ کاچا۔ جھوٹا ہے ۔ خام ہے ۔ آواگون ۔ تناسخ۔ پربھ سیوا۔ خدمت خدا۔ آپ تیاگ۔ خودی چھوڑ کر ۔ سرن گوردیو ۔ فرشتے گرو کے سایہ میں۔ رتن جنم۔ قیمتی زندگی ۔ ادھار۔ ادھار۔ بچاؤ۔ ادھار۔ آسرا۔ اپاو۔ کوشش۔ جہد۔ چھو سنہارے ۔ نجات۔ بھگت۔ عبادت۔ بانچھت ۔ خواہش۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچا انسان ہی حقیقت اور اصلیت سوچ سمجھ کر کہتا ہے ۔ جنے زندگی بیفائدہ گذار دی وہ جھوٹا ہے اور کچا ہے ۔ جو خودی چھوڑ کر سائے میں مرشد کے رہتا ہے خدمت خدا سے اپنا تناسخ مٹا لیتا ہے ۔ اس طرح سے قیمتی زندگی بچ ج جاتی ہے برائیوں سے اور ریاض الہٰی سے زندگی کو سہارا ملتاہے ۔ بیشمار کوشش و کاوش سے نجات نہیں ہے ملتی ۔ خواہ آپ ویدوں سمرتیوں شاشتروں کی کتنی سوچ و چار کرؤ۔ دل وجان سے عبادت وریاضت الہٰی کیجیئے ۔ اے ناک دل کی خواہش کی مطابق پھل پاؤ گے ۔ اپنے کدا کی عبادت میںر یاض میں دل لگا گے ۔

سنّگِ ن چالسِ تیرےَ دھنا ॥
توُنّ کِیا لپٹاۄہِ موُرکھ منا ॥
سُت میِت کُٹنّب ارُ بنِتا ॥
اِن تے کہہُ تُم کۄن سناتھا ॥
راج رنّگ مائِیا بِستھار ॥
اِن تے کہہُ کۄن چھُٹکار ॥
اسُ ہستیِ رتھ اسۄاریِ ॥
جھوُٹھا ڈنّپھُ جھوُٹھُ پاساریِ ॥
جِنِ دیِۓ تِسُ بُجھےَ ن بِگانا ॥
نامُ بِسارِ نانک پچھُتانا ॥੫॥
لفظی معنی:
سنگ۔ ساتھ۔ چالس۔ جائیگی ۔ دھنا۔ دولت۔ پٹاویہہ۔ پٹا ہے ۔ محبت کرتا ہے ۔ ست۔ بیٹا۔ فرزند۔ میت۔ دوست۔ یار۔ کٹنب۔ قبیلہ ۔ خاندان۔ بنتا۔ عورت۔ زن۔ بیوی ۔ سناتھا۔ وفادر۔ فرمانبردار۔ سنا تھا۔ وفادار آقا۔ اس اسب ۔ گہوڑے ۔ہستی ۔ ہاتھی ۔ ڈلف دکھاوا۔ پاساری ۔ پھیلاؤ۔ تس۔ اسے ۔ پجے ۔ سمجھے ۔ بیگانا۔ بے گیانا۔ بے علم۔ نادنا۔ وسار۔ بھلا کر۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے انسان یہ دولت یہ سرمایہ تیرے ساتھ نہ جائیگا۔ کیوں اس سے پریم لگات ہے ۔ یہ کام نہ تیرے آئیگا۔ بیٹا ہے یا دوست ہے یا بیوی ہے یا کنبہ ہے کون ساتھ نبھائیگا۔ حکمرانی اور خوشیاں اور دولت کے انبار بھی ہوں ان تمام عیشق و آرام ہوتے ہوئے کیسے نجات تم پاؤ گے ۔ گھوڑے ہاتھی رتھوں کی اسواریاں یہ جھوٹا دکھاوا ہے ۔ اور جھوٹا ہی ہ پھیلاوا ہے ۔ جس نے یہ نعمتیں دی ہیں اسے نہیں جانتا جاہل ہے دیوانہ ہے ۔ نام خدا کا بھلا کے نام آخر پھر پچھتانہ ہے ۔

گُر کیِ متِ توُنّ لیہِ اِیانے ॥
بھگتِ بِنا بہُ ڈوُبے سِیانے ॥
ہرِ کیِ بھگتِ کرہُ من میِت ॥
نِرمل ہوءِ تُم٘ہ٘ہارو چیِت ॥
چرن کمل راکھہُ من ماہِ ॥
جنم جنم کے کِلبِکھ جاہِ ॥
آپِ جپہُ اۄرا نامُ جپاۄہُ ॥
سُنت کہت رہت گتِ پاۄہُ ॥
سار بھوُت ستِ ہرِ کو ناءُ ॥
سہجِ سُبھاءِ نانک گُن گاءُ ॥੬॥
لفظی معنی:
گر کی مت۔ سبق مرشد ۔ بھگت ۔ عبادت وریاضت ۔ سیانے ۔ دانشمند۔ من میت۔ دل سے پیارے ۔ نرمل۔ پاک۔ چیت ۔ ذہن دل۔ کل وکھ ۔ گناہ ۔ جرم۔ سنت۔ سننے سے ۔ کہت ۔ کہنے سے ۔ رہت۔ رہنے سے ۔ گت۔ نجات۔ سار بھوت بست ۔ سچا حقیقی نتیجہ ۔ سہج سبھائے ۔ پر سکون پیار سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے نادان مرشد سے سبق حاص کر۔ الہٰی عشق کے بغیر بہت سے دانشمند بھی اپنی زندگی میں ناکامیاب ہوگئے لہذا عبادت وریاضت کر۔ اے میرے دل دوست خدا کی عبادت کرو عبادت سے تمہارا دل پاک ہوجائیگا۔
کونل کے پھول کی مانند پائے الہٰی پاؤں کو دلمیں بساؤ تاکہ تمہارے دیرینہ گناہ مٹ جائیں۔
خود عبادت کرؤ اوروں کو کراؤ نام سنو نام کہو نام اپنا کر نجات تم پاؤ گے ۔
الہٰی نام ہی سچا اور اصلی نعمت ہے زندگی کے لئے اطمینان اور تسلی سے تم نانک خدا کے گن گاؤ۔

گُن گاۄت تیریِ اُترسِ میَلُ ॥
بِنسِ جاءِ ہئُمےَ بِکھُ پھیَلُ ॥
ہوہِ اچِنّتُ بسےَ سُکھ نالِ ॥
ساسِ گ٘راسِ ہرِ نامُ سمالِ ॥
چھاڈِ سِیانپ سگلیِ منا ॥
سادھسنّگِ پاۄہِ سچُ دھنا ॥
ہرِ پوُنّجیِ سنّچِ کرہُ بِئُہارُ ॥
ایِہا سُکھُ درگہ جیَکارُ ॥
سرب نِرنّترِ ایکو دیکھُ ॥
کہُ نانک جا کےَ مستکِ لیکھُ ॥੭॥
لفظی معنی:
گن گاوت ۔ الہٰی حمدوثناہ سے ۔ میل ۔ناپاکیزگی ۔ ہونمے ۔ خودی وکہہ۔ زہر۔ پھیل۔ پھیلاؤ ۔ اچنت۔ بیفکر۔ گراس۔ لقمہ ۔ سادھ سنگ ۔ سادہو۔ کی صحبت میں۔ سچ دھنا۔ حقیقی و دولت ۔ پونجی ۔ سرمایہ ۔ سنچ ۔ اکھٹی کرکے ۔ بیوہار۔ سوداگر ی ۔ درگیہہ ۔ دربار الہٰی۔ جیکار۔ فتح۔ ست۔ سرب نرنتر۔ سب کے اندر۔ مستک۔ پیشانی
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی حمدوثناہ سے اے انسان تیری برائیوں اور بدیوں کی ناپاکیزگی دور ہوجائیگی ۔ اور خودی کی زہر جو پھیل چکی ہے ۔ ختم ہوجائیگی ۔ بیفکر ہوکر آرام سے رہو اور ہر سانس اور ہر لقمہ الہٰی نام دلمیں بسا۔ اے دل دانشمندی چھوڑ کر پاکدامن عارف کی صحبت قربت میں رہ کر سچی دولت حاسل کر ۔ خدا سچا سرمایہ ہے ۔ اس سے یہاں ارام اور دربار الہٰی میں فتح نصیب ہوتیہے ۔ سب کے اندر زہر سو نور اسی کا ہے تو دیکھ۔ قمست میں ہو جن کے نانک اور پیشانی پر لیکہہ یا تحریر ہے ۔

ایکو جپِ ایکو سالاہِ ॥
ایکُ سِمرِ ایکو من آہِ ॥
ایکس کے گُن گاءُ اننّتُ ॥
منِ تنِ جاپِ ایک بھگۄنّت ॥
ایکو ایکُ ایکُ ہرِ آپِ ॥
پوُرن پوُرِ رہِئو پ٘ربھُ بِیاپِ ॥
انِک بِستھار ایک تے بھۓ ॥
ایکُ ارادھِ پراچھت گۓ ॥
من تن انّترِ ایکُ پ٘ربھُ راتا ॥
گُر پ٘رسادِ نانک اِکُ جاتا ॥੮॥੧੯॥
لفظی معنی:
ایکو۔ واحد۔ جپ ۔ یاد کر۔ صلاح۔ تعریف کر ۔ ۔ آہے ۔ چاہ کر خواہش کر۔ اننت۔ بیشمار ۔ بگونت ۔ قسمت بنانے والا تقدیر ساز خدا۔ پورن ۔ مکمل ۔ پربھ دیاپ ۔ بستا ہے ۔ بستھار۔ پھیلاؤ ۔ ارادھ۔ دلمیں بسانے سے ۔ پراچھت۔ جرم۔ گناہ ۔ راتا۔ بسیا۔ گر پر ساد۔ رحمت مرشد سے ۔ جاتا۔ پہچانا۔
ترجمہ معہ تشریح:
یاد کر خدا و احد کو و احد کی کر حمدوثناہ واحد ہی کو یاد کر اور ایک ہی کر دلمیں چاہ واحد ہی کی کر توصف جو بیشمار اوصافوں والا ہے ۔ دل وجان سے واحد خدا کی تو صفت صلاح۔ واحد ہے خدا واحد خودہے ۔ ہر سو ہر شے میں نور اسی کا ہے جلوہ افروز ہر جاوہ بستا ہے ۔ بیشمار پھیلاؤ ہوا ہے ۔ واحد سے واحد سے سب نکلے ہیں۔ واحد کی پرستش سے گناہ سبھی مٹ جاتے ہیں۔ د ل و جان میں جس کے خدا کی ہے محبت رحمت سے مرشد کی نانک واحد خدا پہنچانا جاتا ہے ۔

سلوکُ ॥
پھِرت پھِرت پ٘ربھ آئِیا پرِیا تءُ سرناءِ ॥
نانک کیِ پ٘ربھ بینتیِ اپنیِ بھگتیِ لاءِ ॥੧॥
لفظی معنی:
پھر ت پھرت ۔ بھٹکتے بھٹکتے ۔ نو و سرنائے ۔ تیرے سائے میں۔ تیری پناہ میں بینتی ۔ عرض ۔ گذارش ۔ بھگتی ۔ پریم ۔ عیش ۔ محبت ۔
ترجمہ معہ تشریح:
بھٹکتے بھٹکتے اے خدا تیرے سایہ میں آیا ہوں۔ نانک کی ہے گذارش اے خدا اپنا پیار بنائے ۔

اسٹپدیِ ॥
جاچک جنُ جاچےَ پ٘ربھ دانُ ॥
کرِ کِرپا دیۄہُ ہرِ نامُ ॥
سادھ جنا کیِ ماگءُ دھوُرِ ॥
پارب٘رہمُ میریِ سردھا پوُرِ ॥
سدا سدا پ٘ربھ کے گُن گاۄءُ ॥
ساسِ ساسِ پ٘ربھ تُمہِ دھِیاۄءُ ॥
چرن کمل سِءُ لاگےَ پ٘ریِتِ ॥
بھگتِ کرءُ پ٘ربھ کیِ نِت نیِتِ ॥
ایک اوٹ ایکو آدھارُ ॥
نانکُ ماگےَ نامُ پ٘ربھ سارُ ॥੧॥
لفظی معنی:
جاچک جن ۔ بھکاری انسان ۔ جاپے ۔ مانگتا ہ ے ۔ کر کرپا۔ کرم و عنایت اور مہبانی کرکے ۔ سادھ ۔ عارف۔ دہور ۔ دہول۔ پار برہم۔ اے خدا۔ سر دھا نور ۔ خواہش پوری کر ۔ نت نیت ۔ ہر روز ۔ ایک اوٹ ۔ ایک ۔ ایک آسرا۔ ایک آدھار ۔ ایک ہی سہارا۔ سار۔ بنیادی ۔بلند رتبہ ۔مقدس۔
ترجمہ معہ تشریح:
بھکاری انسا ن خدا سے نعمت ہے مانگتا ۔ اپنی کرم و عنایت سے مجھے الہٰی نام دیجیئے ۔
پاکدامن عارفوں کی دہول مانگتا ہوں اے خدا میری یہ خواہش پوری کر۔ ہمیشہ کروں توصف خدا کی اور ساس ساس اے خدا تجھے یاد کروں اور تجھ میں ہو توجہ میری ۔ اے خدا تیرے پاؤں سے ہو پیار میرا اور خدا کی کرون عبادت اور ہو عشق میرا۔ ہے ایک ہی آسرا اور ایک ہی سہارا۔ نانک مانگتا ہے مقدس و پاک نام خدا کا

پ٘ربھ کیِ د٘رِسٹِ مہا سُکھُ ہوءِ ॥
ہرِ رسُ پاۄےَ بِرلا کوءِ ॥
جِن چاکھِیا سے جن ت٘رِپتانے ॥
پوُرن پُرکھ نہیِ ڈولانے ॥
سُبھر بھرے پ٘ریم رس رنّگِ ॥
اُپجےَ چاءُ سادھ کےَ سنّگِ ॥
پرے سرنِ آن سبھ تِیاگِ ॥
انّترِ پ٘رگاس اندِنُ لِۄ لاگِ ॥
بڈبھاگیِ جپِیا پ٘ربھُ سوءِ ॥
نانک نامِ رتے سُکھُ ہوءِ ॥੨॥
لفظی معنی:
درشٹ۔ نگاہ شفقت۔ نظر عنایت ۔ رس۔ لطف۔ مزہ ۔ برلا۔ کوئی ہی ۔ چاکھیا۔ لطف لیا۔ مزہ چکھا۔ سے جن۔ وہ انسان۔ تر پتانے ۔ وہ سیر ہوگئے ۔ ہوئی خواہش باقی نہ رہی ۔ پورن پرکھ ۔ کامل انسان ۔ ڈولانے ۔ ڈگمگاتے ۔ پس و پیش کرتے ۔ سبھر ۔ تالاب ۔ مکمل طور پر ۔ پریم ۔ عشق۔ رس۔ لطف۔ رنگ۔ محبت۔ اپجے ۔ پیدا ہوتا ہے ۔ چاو۔ خوشی۔ سادھ کے سنگ ۔ سادہوں کی صحبت قربت سے ۔ تیاگ۔ ترک۔ چھوڑ کر۔ پر گاس۔ روشن۔ نورانی ۔ اندن۔ روز و شب ۔ لو۔ محبت۔ لاگ ۔ کرنے سے ۔ وڈبھاگی ۔بلند قسمت سے ۔ نام رتے ۔ نام مین محو ہوکر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے رحمت و نگاہ شفقت سے بھاری سکھ ملتا ہے ۔ مگر یہ الہٰی لطف پااتا ہے کوئی ۔ جس نے لیا لطف یہ سیر ہوگئے خواہش نہیں رہی باقی کوئی ۔ کامل انسان ڈگمگاتے نہیں۔ پریم پیار کے لطف اور خوشی سے بھرے رہتے ہیں۔ تالاب کی مانند۔ سادہو کی سحبت و قربت میں خوشیاں ۔ کھڑے ۔ ذوق و شوق مردم رہتے ہیں۔ جو تمام سہارے چھوڑ کر سایہ خدا میں رہتے ہیں۔ دل نورانی ہوجاتا ہے ۔ اور عشق الہٰی پاتے ہیں۔
نام خڈا کا جپنے والے خوش قسمت ہوجاتے ہیں۔ اے نانک نام کے عشق سے سکھ پاتے ہیں۔

سیۄک کیِ منسا پوُریِ بھئیِ ॥
ستِگُر تے نِرمل متِ لئیِ ॥
جن کءُ پ٘ربھُ ہوئِئو دئِیالُ ॥
سیۄکُ کیِنو سدا نِہالُ ॥
بنّدھن کاٹِ مُکتِ جنُ بھئِیا ॥
جنم مرن دوُکھُ بھ٘رمُ گئِیا ॥
اِچھ پُنیِ سردھا سبھ پوُریِ ॥
رۄِ رہِیا سد سنّگِ ہجوُریِ ॥
جِس کا سا تِنِ لیِیا مِلاءِ ॥
نانک بھگتیِ نامِ سماءِ ॥੩॥
لفظی معنی:
منسا۔ دلی خواہش ۔ نرمل۔مت۔ پاک سمجھ ۔ گیان۔ علم ۔ سبق۔ دیال۔ مہربان۔ سیوک ۔ خدمتگار۔ نہال۔ خوش ۔ بندھن۔ غلامی ۔ مکت ۔ آزاد۔ جنم مرن۔ تناسخ۔ دکھ ۔ عذاب ۔ بھرم۔ وہم و گمان۔ چھ پنی ۔ خواہش پوری ہوئی ۔ رور ہیا۔ بستا ہے ۔ سد ۔ ہمیشہ ۔ حضوری ۔ حاضر ناظر ۔ بھگتی ۔ عشق الہٰی۔ ریاضت خدا ۔ نام میں مجذوب ہوجاتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچے مرشد کے پاک سبق سے خادم کی خواہش پوری ہوئی ۔ ایسے انسان پر خدا مہبان ہوتا ہے اور خادم کو خوش کرتا ہے ۔ غلامی ختم کرکے انسان ذہنی غلامی سے آزادی پاتا ہے ۔ تناسخ عذاب و ہم و گمان مٹ جاتے ہیں۔ خواہشات اور یقین مکمل ہوجاتے ہین۔ اور خدا اس کے ساتھ رہتا ہے ۔ ساتھی ہوجاتا ہے ۔ اے نانک جس کا ہے وہ خادم اپنے ساتھ ملاتا ہے ۔ عبادت و ریاضت سے نام خدا میں مجذوب ہوجاتا ہے ۔

سو کِءُ بِسرےَ جِ گھال ن بھانےَ ॥
سو کِءُ بِسرےَ جِ کیِیا جانےَ ॥
سو کِءُ بِسرےَ جِنِ سبھُ کِچھُ دیِیا ॥
سو کِءُ بِسرےَ جِ جیِۄن جیِیا ॥
سو کِءُ بِسرےَ جِ اگنِ مہِ راکھےَ ॥
گُر پ٘رسادِ کو بِرلا لاکھےَ ॥
سو کِءُ بِسرےَ جِ بِکھُ تے کاڈھےَ ॥
جنم جنم کا ٹوُٹا گاڈھےَ ॥
گُرِ پوُرےَ تتُ اِہےَ بُجھائِیا ॥
پ٘ربھُ اپنا نانک جن دھِیائِیا ॥੪॥
لفظی معنی:
سو۔ اسے ۔ گھال۔ محنت و مشقت۔ بھانے ۔ ضائع نہیں جانے دیتا۔ کیا۔ کیا ہوا کام ۔ وسرے ۔ بھلائیا ۔ جائے ۔ بھولیں۔ جاتے ۔ جانتا ہے ۔ جیون جیا۔ جو زندگی کے لئے آسرا ہے ۔ جس کے سہارے زندگی ہے ۔ جو زندگی کی جان ہے ۔ اگن میہہ راکھے ۔ جو آگھ میں بچاتا ہے ۔ گر پر ساد۔ رحمت مرش د سے ۔ ورلا۔ کوئی ہی ۔ لاکھے ۔ سمجھتا ہے ۔ وکھ ۔ زہر ۔ کاڈھے ۔ بچاتا ہے ۔ تت۔ حقیقت ۔ اصلیت ۔ جن۔ خادم۔ دھیائیا۔ یاد کیا۔ گر پورے ۔ کامل مرشد نے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اس خدا کو کیوں بھلائیا جائے جو محنت کو ضائع نہیں جانے دیتا ۔ اسے کیوں بھولین جس کی ہوئی کار سمجھتا ہے ۔ اسے کیوں بھولیں جو آگ میں بھی بچاتا ہے ۔ اسے کہوں بھلائیں ج نے تمام نعمتیں عنایت کی ہیں۔ اسے کیوں بھلائیا جو انسانی زندگی کی جان ہے ۔ رحمت مرشد سے کوئی ہی اسے سمجھتا ہے ۔ اسے کیوں بھلائیں جو دنیاوی دولت کی زہر سے بچاتاہے ۔ اور دیرینہ ٹوٹے ہوئے رشتوں کو جوڑتا ہے ۔ کامل مرشد نے یہ اصلیت سمجھائی ہے ۔ اے خادم نانک ۔ جس نے اپنے خدا میں دھیان لگائیا ہے ۔

ساجن سنّت کرہُ اِہُ کامُ ॥
آن تِیاگِ جپہُ ہرِ نامُ ॥
سِمرِ سِمرِ سِمرِ سُکھ پاۄہُ ॥
آپِ جپہُ اۄرہ نامُ جپاۄہُ ॥
بھگتِ بھاءِ تریِئےَ سنّسارُ ॥
بِنُ بھگتیِ تنُ ہوسیِ چھارُ ॥
سرب کلِیانھ سوُکھ نِدھِ نامُ ॥
بوُڈت جات پاۓ بِس٘رامُ ॥
سگل دوُکھ کا ہوۄت ناسُ ॥
نانک نامُ جپہُ گُنتاسُ ॥੫॥
لفظی معنی:
ساجن۔ دوست ۔ سنت ۔پاکدامن خدا رسیدہ عارف۔ آن۔ دیگر۔ دوسرے ۔ تیاگ چھوڑ کر ۔ ترک کرکے ۔ اوریہہ۔ ۔دوسروں کو ۔ بھگت بھائے ۔ عشق الہٰی کے پریم سے ۔ ترییئے سنسار ۔ اس عالم میں کامیابی ملتی ہے ۔ چھار۔ راکھ ۔ سوآہ ۔ کلیان ۔ خوشحالی ۔ ندھ نام۔ نام کے خزانے سے ۔ بوڈت ۔ جات ۔ ڈوبتے کو ۔ وسرام۔ آرام۔ ٹھکانہ ۔ گن تاس۔ اوصاف کا خزانہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے عارف دوستوں یہ کام کرؤ۔ دوسرے تمام کام چھوڑ کر خدا کو یاد کرؤ۔ اسکی یاد سےس کھ پاؤ۔ خود الہٰی نام کی ریاض کرؤ اور دوسروں سے کراؤ۔ الہٰی پریم پیار سے دنیا میں کامیابیاں نصیب ہوتی ہیں۔ بغیر الہٰی پریم پیار کے اس جسم نے مٹی میں مل جانا ہے خاک بن جانا ہے ۔ تمام خوشہالی اور آرام نام کے خزانے سے ہے ۔ اور ڈوبتے انسان آرام نام کے خزانے سے ہے ۔ اور ڈوبتے انسان کے لئے سہارا اور ٹھکانہ ہے ۔ اے نانک۔ نام کو خدا کو یاد کرؤ ۔ جو اوصاف کا خزانہ ہے ۔ تاکہ تمام عذاب مٹ جائیں۔

اُپجیِ پ٘ریِتِ پ٘ریم رسُ چاءُ ॥
من تن انّترِ اِہیِ سُیاءُ ॥
نیت٘رہُ پیکھِ درسُ سُکھُ ہوءِ ॥
منُ بِگسےَ سادھ چرن دھوءِ ॥
بھگت جنا کےَ منِ تنِ رنّگُ ॥
بِرلا کوئوُ پاۄےَ سنّگُ ॥
ایک بستُ دیِجےَ کرِ مئِیا ॥
گُر پ٘رسادِ نامُ جپِ لئِیا ॥
تا کیِ اُپما کہیِ ن جاءِ ॥
نانک رہِیا سرب سماءِ ॥੬॥
لفظی معنی:
اپجی ۔ پیدا ہوئی ۔ پریت۔ پیار۔ پریم رس۔ پیار کا لطف۔ چاو۔ خوشی ۔ سوآؤ۔ مقصد۔ مدعا۔ نیتر پیکھ ۔ آنکھون سے دیکھ کر۔ درس دیدار ۔ درشن۔ من وگسے ۔ من کھلتا ہے ۔ خوش ہوتا ہے ۔ سادھ چرن دہوئے ۔ پائے پاکدامن صاف کرکے ۔ من تن رنگ۔ دل و جان س ے پیار ۔ برلا۔ کوئی ۔ سنگ۔ ساتھ ۔ دست اشیا۔ میا۔ مہربانی۔ گر پر ساد ۔ رحمت مرشد ۔ اپما۔ تعریف۔ عظمت ۔ سرب سمائے ۔ سب میں بستا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
دوستی ۔ پیار ۔ پیار کا لطف اور شوق پیدا ہوا ۔ دل و جان میں یہی چاہ اور خواہش ہے ۔ آنکھوں سے دیدار کرکے آرام محسوس ہوا۔ پائے پاکدامن دہونے سے دل کھلتا ہے ۔ عارفان الہٰی کے دل وجان میں پریم ہے پیار ہے ۔ کسی کو ہی ان کی صحبت و قربت نصیب ہوتی ہے ۔ مہربانی کرکے اپنی عنایت و شفقت سے ایک اشیا دیجیئے ۔ رحمت مرشد سے تیرا نام اے خدا یا کر سکیں۔ اس کی عطمت بیان سے باہر ہے ۔ اے نانک۔ وہ سب میں بستا ہے ۔

پ٘ربھ بکھسنّد دیِن دئِیال ॥
بھگتِ ۄچھل سدا کِرپال ॥
اناتھ ناتھ گوبِنّد گُپال ॥
سرب گھٹا کرت پ٘رتِپال ॥
آدِ پُرکھ کارنھ کرتار ॥
بھگت جنا کے پ٘ران ادھار ॥
جو جو جپےَ سُ ہوءِ پُنیِت ॥
بھگتِ بھاءِ لاۄےَ من ہیِت ॥
ہم نِرگُنیِیار نیِچ اجان ॥
نانک تُمریِ سرنِ پُرکھ بھگۄان ॥੭॥
لفظی معنی:
بخشند۔ بخشنے والا۔ معاف کردینے والا۔ دین۔ غریب۔ بے زر ۔ کنگال ۔ بھگت و چھل۔ عابدون سے پیار کرنے والا۔ کرپال۔ مہربان۔ اناتھ۔ بے مالک۔ ناتھ ۔ مالک۔ گوبند۔ عالم کے مالک۔ پرتپال۔ پرورش کرنے والا۔ سرب گھٹا۔ سارے دل آو پرکھ ۔ سب سے اول ۔ کارن ۔ سبب ۔ کرتار۔ کرنے والا۔ بھگت ۔ الہٰی پریمی ۔ حنا۔ الہٰی خادم۔ پران۔ زندگی ۔ آدھار۔ آسرا۔ پنیت۔ پاک ۔ مقدس۔ ہیت پیار۔ نرگنیار۔ بے اوصاف۔ نیچ ۔ کمینے ۔ اجان۔ بے سمجھ ۔ پرکھ ۔ بھگوان ۔ خدا۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے بخشنے والے غریبوں ناتوانوں پر تس کرنے والے غریب نواز مہربان۔ عابدان الہٰی سے پیار کرنے والے اور صدیوی مہربان ۔ بے مالکون کے مالک گو بند گوپال۔ سب کی پرورش کرنے والے سب سے اول ہستی سبب اور کارن کے کرنے والے اور الہٰی پریمیوں سے پیار کرنے والے اور زندگی کے سہارے جو تجھے یاد کرتا ہے ۔ پاک اور مقدس ہوجاتا ہے ۔عبادت سے پریم کرنے والے اسے من سے پریم کرتے ہین۔ مگر ہم بے اوصاف کمینے اور بے سمجھ ہیں۔ اے نانک۔ ہم الہٰی سایہ میں آئے ہیں۔

سرب بیَکُنّٹھ مُکتِ موکھ پاۓ ॥
ایک نِمکھ ہرِ کے گُن گاۓ ॥
انِک راج بھوگ بڈِیائیِ ॥
ہرِ کے نام کیِ کتھا منِ بھائیِ ॥
بہُ بھوجن کاپر سنّگیِت ॥
رسنا جپتیِ ہرِ ہرِ نیِت ॥
بھلیِ سُ کرنیِ سوبھا دھنۄنّت ॥
ہِردےَ بسے پوُرن گُر منّت ॥
سادھسنّگِ پ٘ربھ دیہُ نِۄاس ॥
سرب سوُکھ نانک پرگاس ॥੮॥੨੦॥
لفظی معنی”
ویکنٹھ ۔ جنت۔ بشہت۔ مکت۔ نجات۔ چھٹکارا۔ موکھ ۔ نجات۔ دیک نمکھ ۔ ایک آنکھ جھپکنے کی دیر میں۔ راج ۔ حکومت۔ بھوگ۔ نعمتین۔ وڈیائی ۔ شہرت و عظمت ۔ کتھا ۔ کہانی ۔ بھوجن۔ کھانے ۔ کاپر ۔ کپڑے ۔ سنگیت ۔ گانے ۔ رسنا۔ زبان ۔ نیت۔ ہر روز۔ بھلی ۔ سوکرنی ۔ وہ اعمال نیک اور اچھے ہین۔ سوبھا۔ شہرت دھنونت ۔ مالدار۔ دولتمند۔ ہردے ۔ دلمیں ۔ گرمت ۔ سبق مرشد۔ سادھ سنگ۔ صحبت پاکدامن ۔ نواس۔ قربت ۔ ٹھکانہ ۔ سرب سوکھ ۔ ہر طرح کے آرام وآسائش ۔ پر گاس۔ ذہنی روشنی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس انسان نے آنکھ جھپکنے کی دیر کے لئے کی ہے ۔ حمدوثناہئے خدا۔ جنت۔ ذہنی آزادی اور بدیوں سے چھٹکارا پائیگا۔ اے انسان اگر الہٰی نا م کی کتھا کہانی تیرے دل کو پیاری ہے ۔ اس نے حکومت عظمت شہرت حشمت شان و شوکت پائی ہے ۔ جو انسان زباں سے نام خدا کا لیتا ہے ۔ ہر روز۔ سمجھو اس نے کھانے کپڑے اور میتھے گانے ہیں۔ جس کے دلمیں سبق کامل مرشد بستا ہے ۔ اسکا ہی اخلاق ہے اچھا اچھا بیو ہار بھی ہے ۔ اسکا اچھے ہین اعمال نیک شہرت ہے سرمایہ دار بھی ہے ۔ اے خدا مجھے عارفوں پاکدمنوں صحبت و قربت عنایت فرما ۔ اے نانک۔ یہی سب سکھوں کا منبع ہے اسی سے ذہنی جہالت کا وتا دور اندھیرا ہے ۔

سلوکُ ॥
سرگُن نِرگُن نِرنّکار سُنّن سمادھیِ آپِ ॥
آپن کیِیا نانکا آپے ہیِ پھِرِ جاپِ ॥੧॥
لفظی معنی”
سرگن۔ سب اوصافوں والا جس مین ہیں۔ سب اوصاف اور سب اوصافوں کا مالک ہے ۔ نرگن۔ جس میں نہیں کوئی اوصاف اور واحد ہے ۔ نرنکار۔ جسکا نیں کوئی تن بدن اور بے حجم ہے وہ سن سمادھی ۔ جو و احد ہے وحدت میں ہے نہ ہی کوئی سنگی سا تھی ہے ۔ آپن کیا۔ جس نے خو د عالم بنائیا ہے ۔ خو دہی یاد کرتا ہے اسے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سب گن والا ہوتے ہوئے بھی بلا اوصاف ہے وہ بلاحجم و آکار ہوتے ہوئے بھی جسموں اور آکارون والا ہے ۔ واحد ہے کو دہی مجذوب ہے ۔ خود ہی پیدا کرکے اپنے کئے ہوئے کو یاد کرتا ہے وہ ۔

اسٹپدیِ ॥
جب اکارُ اِہُ کچھُ ن د٘رِسٹیتا ॥
پاپ پُنّن تب کہ تے ہوتا ॥
جب دھاریِ آپن سُنّن سمادھِ ॥
تب بیَر بِرودھ کِسُ سنّگِ کماتِ ॥
جب اِس کا برنُ چِہنُ ن جاپت ॥
تب ہرکھ سوگ کہُ کِسہِ بِیاپت ॥
جب آپن آپ آپِ پارب٘رہم ॥
تب موہ کہا کِسُ ہوۄت بھرم ॥
آپن کھیلُ آپِ ۄرتیِجا ॥
نانک کرنیَہارُ ن دوُجا ॥੧॥
لفظی معنی:
اکار۔ جسم۔ حجم۔ درسٹتا۔ دکھائی دیتا ۔ کہہ تے ۔ کس کے ساتھ۔ سن سمادھ ۔ خدا کی وہ حالت جب خدا سکان بے حس و حرکت تھا اور عالم نہ تھا۔ و یر برودھ ۔ تو دشمنی اور جھگڑا ۔ درن چہن ۔ شکل وصورت ۔ رنگ و نسل۔ جاپت۔ پتہ نہیں تھا۔ ہرکھ سوگ۔ غمی ۔ خوشی۔ بیاپت۔ پتہ نہیں تھا۔ ہرکھ سوگ۔ غمی خوشی ۔ بیاپت۔ پیدا ہوتے ۔ درتیجا ۔ برتائیاں۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب دنیا میں کوئی شکل وصورت اور جسم نہ تھے دیکھنے میں تو گناہ ظور میں نہ تھی و ثواب جائز نا جائز کس کے ساتھ ہوتے ۔ جب خدا سکتے و خاموشی و خوئش دھیان میں تھا خدا تو کس کے ساتھ دشمنی اور جھگڑے ہوتے ۔ جب خدا کی کوئی شکل و صورت کا پتہ تک نہ تھا تب غمی اور خوشی کسے اور کیسے ہوتی ۔ جب خدا واحد تھا اور کچھ نہ تھا کو محبت اور وہم گمان بھی نہ تھا۔ یہ علام سب اسکا کھیل اسی کا ہے بنائیا ہوا۔ اے نانک اس کے علاوہ نہیں کوئی دوسرا۔

جب ہوۄت پ٘ربھ کیۄل دھنیِ ॥
تب بنّدھ مُکتِ کہُ کِس کءُ گنیِ ॥
جب ایکہِ ہرِ اگم اپار ॥
تب نرک سُرگ کہُ کئُن ائُتار ॥
جب نِرگُن پ٘ربھ سہج سُبھاءِ ॥
تب سِۄ سکتِ کہہُ کِتُ ٹھاءِ ॥
جب آپہِ آپِ اپنیِ جوتِ دھرےَ ॥
تب کۄن نِڈرُ کۄن کت ڈرےَ ॥
آپن چلِت آپِ کرنیَہار ॥
نانک ٹھاکُر اگم اپار ॥੨॥
لفظی معنی”
ہووت۔ ہوتا ہے ۔ کیول۔ صرف۔ دھنی ۔مالک ۔ بندھ ۔ غلامی ۔ مکت ۔ آزادی۔ گنی ۔ سمجھیں۔ شمار کریں۔ ایکہہ۔ ایک ہی ۔ اگم۔ انسانی رسائی سے اوپر ۔ اپار۔ جس کا کوئی کنارہ نہ ہو ۔ نرک ۔ دوزخ۔ سورگ۔ بہشت۔ جنت۔ اوتار۔ پیدا ہونے والے ۔ نرگن۔ بلا اوصاف۔ سو۔ روح۔ سکت۔ دنیاوی قائنات قدرت۔ ٹھائے ۔ ٹھکانہ ۔ آپیہہ آپ ۔ خود بخود۔ جوت۔ نور۔ نڈر۔ بیخوف۔ ڈرے ۔ خوف۔ چلت ۔ کھیل ۔بیوہار۔ کرنیہار۔ کرنے کے لائق۔ ٹھاکر۔ آقا۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب خدا ہی اکیال تھا۔ تب کس کو غلام اور کسے آزاد خیال کریں۔
جب خدا واحد انسانی رسائی سے بلند اعداد و شمار سے باہر اکیلا تھا تو اسی وقت کسے بہشت حاصل تھی اور کسے دوزخ نصیب تھا۔ جب دنیاوی دولت اور سرمایہ کا وجود ہی نہ تھا تب جاندار اور قائنات قدرت کہاں تھی ۔ جب عالم میں نور الہٰی واحد تھا ۔ تو کسے خوف تھا اور کون بیخوف تھا ۔ اے نانک۔ خدا ہی اپنے کھیل اور قائنات قدرت کو بنانے والا ہے ۔ وہ انسانی رسائی سے بعدی و بلند و بالا ہے اور لا محدود ہے ۔

ابِناسیِ سُکھ آپن آسن ॥
تہ جنم مرن کہُ کہا بِناسن ॥
جب پوُرن کرتا پ٘ربھُ سوءِ ॥
تب جم کیِ ت٘راس کہہُ کِسُ ہوءِ ॥
جب ابِگت اگوچر پ٘ربھ ایکا ॥
تب چِت٘ر گُپت کِسُ پوُچھت لیکھا ॥
جب ناتھ نِرنّجن اگوچر اگادھے ॥
تب کئُن چھُٹے کئُن بنّدھن بادھے ॥
آپن آپ آپ ہیِ اچرجا ॥
نانک آپن روُپ آپ ہیِ اُپرجا ॥੩॥
لفظی معنی”
ابناسی۔ لافانی ۔ آسن۔ ٹھکانہ ۔ تخت۔ تیہہ۔ تب ۔ جنم مرن۔ زندگی اور موت ۔ وناسن ۔ خاتمہ ۔ پورن۔ کامل۔ مکمل۔ کرتا۔ کرتار۔ کرنے والا۔ پربھ سوئے ۔ خدا وہی ہے ۔ جسم کی تراس۔ موت کا خوف۔ فرشتہ موت کا خوف۔ اوگت ۔ لافناہ ۔ دنیاوی حالت سے بیخر ۔ اگوچر ۔جس کے متعلق بیان نہ ہو سکے ۔ چتر گپت ۔ انسانی اعمال کے راز۔ تحریر کرنےو الے ۔ ناتھ ۔ مالک۔ نرنجن۔ پاک۔ ییداغ۔ اگاوھ ۔ جسکا اندازہ نہ ہو سکے ۔ بندھن۔ غلامی۔ اچرجا۔ حیران کرنے والا۔ اپرجا۔ پیدا کیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب خدا اپنے خوئش ٹھکانے پر بلا حرکت و کار و حدت میں تھا۔ تب موت و پیدائش کہان تھی ۔ جب کامل خدا کار ساز ۔ کرتار عالم میں واحد تھا تو موت کے فرشتے کا خوف کسے ہوتا ہے ۔ جب آنکھون سے اوجھل ۔ فہم وفہم سے بعید نا قابل بیان خدا خود ہی تھا واحد ۔ تب جاسو سان الہٰی لکھتے ہین۔ اعمال انسان سے حساب کون پوچھتا تھا۔ جب مالک پاک خدا نا قابل بیان اور بعید از انازہ واحد تھا۔ تب کون تھا ۔ غلام اور آزادی کسے تھی ۔ تب حیران کرنے والا حیرانی بھر ا خدا واحد و لاثانی تھ ا۔ اے نانک اپنا پھیلاؤ اپنی شکل وصورت قائنات قدرت خود ہی پیدا کرنے والا ہے ۔

جہ نِرمل پُرکھُ پُرکھ پتِ ہوتا ॥
تہ بِنُ میَلُ کہہُ کِیا دھوتا ॥
جہ نِرنّجن نِرنّکار نِربان ॥
تہ کئُن کءُ مان کئُن ابھِمان ॥
جہ سروُپ کیۄل جگدیِس ॥
تہ چھل چھِد٘ر لگت کہُ کیِس ॥
جہ جوتِ سروُپیِ جوتِ سنّگِ سماۄےَ ॥
تہ کِسہِ بھوُکھ کۄنُ ت٘رِپتاۄےَ ॥
کرن کراۄن کرنیَہارُ ॥
نانک کرتے کا ناہِ سُمارُ ॥੪॥
لفظی معنی”
نرمل۔ پاک ۔ پر کھ پت ۔ انسانوں کا ملاک۔ نرنجن۔ بیداگ۔ پاک۔ نرنکار۔ بلا شکل و صورت ۔ بلاحسم۔ نربان۔ بلا خواہشات ۔ جگدیس ۔ مالک عالم۔ چھل چھدر۔ بدکاریان۔ دہوکا بازی ۔ فریب کاری ۔ جوت سروپی ۔نورانی چہرہ ۔ صرف نور۔ نور میں مجذوب۔ ترپتاوے ۔ سیر ہوتا ہے ۔ کرن کراون ۔ کرنے اور کرانے والا۔ کرنیہار۔ کرنے کے لائق ۔ کرتے ۔ کرتار ۔ خدا۔ سمار۔ اندازہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب مالک اسانوں کا تھا واحد پاک خدا تو ناپاکیزگی دور کس کی کرنی تھی ۔ جب عالم میں تھا واحد کدا تو دہوکا فریب کس سے ہونا تھا۔ جب خدا اپنی ہی نورانی میں تھا مجذوب تو بھوک کسے تھی ہونی اور سیر کون ہون اتھا ۔ کرنے اور رانے والا ہے ۔خدا واحد اے نانک کار ساز کرتا راندازوں سے باہر ہے ۔

جب اپنیِ سوبھا آپن سنّگِ بنائیِ ॥
تب کۄن ماءِ باپ مِت٘ر سُت بھائیِ ॥
جہ سرب کلا آپہِ پربیِن ॥
تہ بید کتیب کہا کوئوُ چیِن ॥
جب آپن آپُ آپِ اُرِ دھارےَ ॥
تءُ سگن اپسگن کہا بیِچارےَ ॥
جہ آپن اوُچ آپن آپِ نیرا ॥
تہ کئُن ٹھاکُرُ کئُنُ کہیِئےَ چیرا ॥
بِسمن بِسم رہے بِسماد ॥
نانک اپنیِ گتِ جانہُ آپِ ॥੫॥
لفظی معنی”
سوبھا۔ شہرت۔ مشہوری ۔ آپن سنگ۔ اپنے ہی ساتھ ۔ سرب ۔ کلا۔ تمام قوتوں سے آراستہ ۔ پربیسن۔ دور ۔ اندیش۔ ماہر ۔ چین ۔ سمجھنا۔ آپن آپ۔ خود بخود ۔ اردھارے ۔ دلمیں بسائے ۔ سگن۔ اپ سگن۔ نیک و بد علامات ۔ اوچ۔ بلند۔ تیرا۔ نزدیک۔ ٹھاکر۔ آقا۔ چیرا۔ شاگرد ۔ بسمن۔ حیرانگی ۔ بسم۔ حیران۔ بسماد۔ حیرانگی کی حالت میں۔ گت۔ حالت۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب خدا اپنی نیکی اور شہرت از خود کرنے والا تھا ۔ تو وہاں مان۔ باپ دوست بیٹے بھائی کہاں تھے ۔ جب خدا خود ہی ہر فن مولا تھا سب طاقتوں سے مرقع تتھا اور تب ودیوناور فرانوں کو مطالعہ کرنے وال اکونت ھا۔ جب خدا خود ہی اپنے آپ میں مصروف تھا اور اپنے ہی دلمیں بستا تھا۔ تو نیک و بد علامات کی کون وچار یں کرتا تھا۔ جب آپ ہی نزدیک اور خود ہی اونچا تھا۔ تب کون مالک کون خادم تھا۔ حیرانگی بھی حیران ہو رہی ہے ۔ اے نانک خدا اپنے متعلق خود ہی جانتا ہے ۔

جہ اچھل اچھید ابھید سمائِیا ॥
اوُہا کِسہِ بِیاپت مائِیا ॥
آپس کءُ آپہِ آدیسُ ॥
تِہُ گُنھ کا ناہیِ پرۄیسُ ॥
جہ ایکہِ ایک ایک بھگۄنّتا ॥
تہ کئُنُ اچِنّتُ کِسُ لاگےَ چِنّتا ॥
جہ آپن آپُ آپِ پتیِیارا ॥
تہ کئُنُ کتھےَ کئُنُ سُننیَہارا ॥
بہُ بیئنّت اوُچ تے اوُچا ॥
نانک آپس کءُ آپہِ پہوُچا ॥੬॥
لفظی معنی
اچھل ( جسے ) جس سے فریب نہ وہ سکے ۔ اھید ۔ جسے ختم نہ کیا جا سکے ۔ ابھید۔ جسکاراز معلوم نہ ہو سکے ۔ سمائیا۔ موجود ہے ۔ اوہا۔ اسے ۔ ویاپت ۔ اثر انداز ۔ آویس۔ آداب۔ سجدہ ۔ سلام۔ نمسکار۔ پر ویس ۔ داخل ۔ بھگونتا۔ قسمت بنانے والا۔ خدا۔ اچنت۔ بیفکر۔ چنتا۔ فکر۔غم۔ پتیارا۔ اطمینان ۔ تسلی ۔ کتھے ۔ کہنے والا۔ سننے ہار ۔ سننے والا۔ بے انت۔ بیشمار۔ پہور چا۔ برابر
ترجمہ معہ تشریح:
جس لا فریب لا فناہ مخفی راز جس حالت میں بستا ہے ۔ اسے کیسے دنیاوی مادیات ( مائیا) کسے اثر انداز ہوگی ۔
خدا کو خود ہی اداب و سلام ۔ دخل نہیں تینوں اوصافوں کا ۔ جب واحد ہے واحد ہے خدا تب بیفکر ہے کون اور فکر مند کون ہے ۔ جب اسے اپنے آپ پر تسلی و اطمینان بھی ہے ۔ تب کون کرتا ہے بیان اور کون سنتا ہے ۔ حد سے تجاوز کرتا بیشمار وہ ہے اور اونچوں سے بھی اونچا ہے ۔ اے ناک اپنی نظر اپ کدا ہے اور وہ لاثانی ہے ۔

جہ آپِ رچِئو پرپنّچُ اکارُ ॥
تِہُ گُنھ مہِ کیِنو بِستھارُ ॥
پاپُ پُنّنُ تہ بھئیِ کہاۄت ॥
کوئوُ نرک کوئوُ سُرگ بنّچھاۄت ॥
آل جال مائِیا جنّجال ॥
ہئُمےَ موہ بھرم بھےَ بھار ॥
دوُکھ سوُکھ مان اپمان ॥
انِک پ٘رکار کیِئو بکھ٘ز٘زان ॥
آپن کھیلُ آپِ کرِ دیکھےَ ॥
کھیلُ سنّکوچےَ تءُ نانک ایکےَ ॥੭॥
لفظی معنی:
پرپنچ۔ عالم۔ جہاں ۔ دنیا۔ رچیو۔ پیدا کی ۔ آکار۔ پھیلاؤ ۔ اور اسمیں تین اوصاف رجو ۔ ستو ۔ طمع کا پھیلاو را چ کیا۔ پاپ۔ گناہ ۔ جرم۔ پن۔ ثواب۔ نرنک۔ دوزخ۔ تھر گ۔ جنت۔ طہشت ۔ سبھا وت چاہاتا ہے ۔ آل جال۔ اولاد کا پھندہ ۔ سائیا جنجال۔ دنیاوی دولت کے پھندے ۔ ہونمے ۔ خودی ۔ موہ۔ محبت۔ بھرم۔ شک و شبہات ۔ بھے ۔ خوف۔ دوکھ ۔ سوکھ ۔ عذاب و آسائب ۔ انک پرکار۔ بیشمار قسم کے وکھان۔ تزکرے ۔ سنکو پے ۔ قیامت برپا کرتا ہے ۔ یا کھیل ختم کرتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جب خدا عالم کو ظہور میں لائیا تو تین اوصاف کا پھیلاؤ کیا۔ جو جھوٹا اور جھوٹ پھیلائیا ہے ۔ تینوں اوساف پھیلے تو گناہ و ثواب اور نیکی ۔ بدی کا اذکار ہونے لگا۔ اس کے ملے میں کوئی جنت چاہتا ہے اور رکھے دوزخ نصیب ہوا۔ اولاد۔ اور دولت کے پھندے پیدا ہوئے ۔ خودی ۔ محبت ۔ شک و شبہات و خوف نے زور کیا۔ عذاب و آسائ ۔ شان و شوکت ۔ اور ذلت نمودار ہوئی ۔ بیشمار قسم کے تذکرے ہونے لگے ۔ خدا۔ اپنا کھیل آپ کرکے ہی دیکھ رہا ہے اور جب کھیل ختم کر دیتا یعنی جب قیامت برپا ہوجاتی ہے تو اے نانک پھر وا حد خدا ہی رہ جاتا ہے ۔

جہ ابِگتُ بھگتُ تہ آپِ ॥
جہ پسرےَ پاسارُ سنّت پرتاپِ ॥
دُہوُ پاکھ کا آپہِ دھنیِ ॥
اُن کیِ سوبھا اُنہوُ بنیِ ॥
آپہِ کئُتک کرےَ اند چوج ॥
آپہِ رس بھوگن نِرجوگ ॥
جِسُ بھاۄےَ تِسُ آپن ناءِ لاۄےَ ॥
جِسُ بھاۄےَ تِسُ کھیل کھِلاۄےَ ॥
بیسُمار اتھاہ اگنت اتولےَ ॥
جِءُ بُلاۄہُ تِءُ نانک داس بولےَ ॥੮॥੨੧॥
لفظی معنی:
ابگت۔ لافناہ۔ بھگت۔ الہٰی عاشق۔ الہٰی پریمی ۔ پاسار۔ پھیلاؤ۔ سنت پرتاپ۔ خدا رسیدوں عارفوں کے وقار اور عزت ک ے لئے ۔ دوہا پکھ ۔ دونوں طرفوں مراد سنت اور دنیاوی دولت ۔ دھنی ۔ مالک۔ سوبھا۔ نیک شہرت۔ بنی ۔ جائز۔ کوتک ۔ کھیل۔ انند۔ خوشیان۔ نرجوگ۔ بیلاگ۔ بھاوے ۔ چاہتا ہے ۔ تس۔ اسے ۔ آپن ناے ۔ اپنے نام۔ بیشمار۔ حساب سے باہر۔ اتھاہ ۔ اندازے سے باہر ۔ انگت ۔ گینتی یا شمار سے باہر۔ انوے ۔ تول سے باہر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جہاں خدا ہے وہاں اسکا عاشق اور اسکاپریمی ہے اور جہاں اسکا پریمی ہے وہاں خدا ہے ۔ ہر جا الہٰی عاشقوں پریمیوں اور پا کدامن عارفوں کی عظمت و عزت و حشمت کے لئے اس عالم کو پیدا کیا ہے ۔ اور یہ پسارا ہے ۔ ہر دو خیا لون دنیاوی دولت کے خواہشمندوں اور پر ستاروں اور الہٰی پریمیوں کا ہے ۔ مالک خدا۔ الہٰی پریمیوں کی شہرت وعظمت و حشمت بھی الہٰی شان و شوکت ہی ہے ۔
خڈا خود ہی دنیا مین کھیل تماشے کر رہا ہے او رخود ہی اس سے سکون اور خوشی حاصل کر رہا ہے ۔ خود ہی دنیاوی لذتیں اور لطف اُتھارہا ہے ۔ اور خود ہی اس سے بیلاگ اور بے واسطہ ہے ۔ جسے چاہتا ہے ۔ اپنے نام میں لگاتا ہے ۔ اور جسے چاہتا ہے دنیاوی دولت کے کھیل تماشوں میں لگادیتا ہے ۔ اعداد و شمار س بعید ۔ ول سے باہر ہے خدا ۔ اے نانک۔ جیسے ہے فرمان الہٰی ویسے ہی خادم کہتا ہے ۔

سلوکُ ॥
جیِء جنّت کے ٹھاکُرا آپے ۄرتنھہار ॥
نانک ایکو پسرِیا دوُجا کہ د٘رِسٹار ॥੧॥
لفظی معنی ترجمہ معہ تشریح:
اے سب مخلوقات ک مالک سب میں تیرا نور ہے ۔ دوسرا کوئی نظر نہیں آتا نانک۔ پھیلا ہے واحد الہٰی نور

اسٹپدیِ ॥
آپِ کتھےَ آپِ سُننیَہارُ ॥
آپہِ ایکُ آپِ بِستھارُ ॥
جا تِسُ بھاۄےَ تا س٘رِسٹِ اُپاۓ ॥
آپنےَ بھانھےَ لۓ سماۓ ॥
تُم تے بھِنّن نہیِ کِچھُ ہوءِ ॥
آپن سوُتِ سبھُ جگتُ پروءِ ॥
جا کءُ پ٘ربھ جیِءُ آپِ بُجھاۓ ॥
سچُ نامُ سوئیِ جنُ پاۓ ॥
سو سمدرسیِ تت کا بیتا ॥
نانک سگل س٘رِسٹِ کا جیتا ॥੧॥
لفظی معنی:
گتھے ۔ کہتا ہے ۔ سنتہار۔ سننے والا۔ وستھار۔ پھیلاؤ۔ سر شٹ۔ عالم ۔ اپائے ۔ پیدا کرتا ہے ۔ بھانے ۔ ر ضاسے ۔ سمائے ۔ اپنے اندر جذب کر لیتا ہے ۔ مجذوب۔ بھن۔ علیحدہ ۔ سوت۔ نظام۔ بجھائے ۔ سمجھائے ۔ سچ نام ۔ سچ اور خدا کا سچا نام۔ سمدرسی ۔ سب کو ایک نظر سے دیکھنے والا۔ تت۔ حقیقت ۔ بیتا۔ جاننے والا۔ سگل ۔ ساری۔ جیتا۔ فاتح ۔
ترجمہ معہ تشریح:
خود ہی خدا ہے کہنے والا خود ہی سننے والا ہے خود ہی واحد ہے اور اسی کا یہ پسارا ہے ۔ جب چاہتا ہے عالم پیدا کرتا ہے جب چاہتا ہے قیامت سے اپنے میں ہی مجذوب کر لیتا ہے ۔ فرامن الہٰی کے بگیر کچھ ہونے والا ۔ سارے علام میں نطام اسی کا قائم ہے اور چلتا ہے ۔ جسے خود سمجھاتا ہے ۔ سچا نام الہٰی وہی پاتا ہے ۔ جو سب کو دیکھے ایکنظر سے حقیقت کی پہان اسے اے نانک وہ فاتح ہے سارے عالم کا ۔

جیِء جنّت٘ر سبھ تا کےَ ہاتھ ॥
دیِن دئِیال اناتھ کو ناتھُ ॥
جِسُ راکھےَ تِسُ کوءِ ن مارےَ ॥
سو موُیا جِسُ منہُ بِسارےَ ॥
تِسُ تجِ اۄر کہا کو جاءِ ॥
سبھ سِرِ ایکُ نِرنّجن راءِ ॥
جیِء کیِ جُگتِ جا کےَ سبھ ہاتھِ ॥
انّترِ باہرِ جانہُ ساتھِ ॥
گُن نِدھان بیئنّت اپار ॥
نانک داس سدا بلِہار ॥੨॥
لفظی معنی:
ہاتھ۔ زیر فرمان۔ ناتھ ۔ مالک۔ منہو۔ دل سے ۔ وسارے ۔ بھلائے ۔ تج ۔ چھوڑ ۔ اور ۔ اور۔ سب سیر ۔ سب کے اوپر ۔ رائے ۔ راجہ ۔ حکمران ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ساری مخلوقات زیر فرمان خدا ہے رحمت کرتا ہے مہربان ہے ۔ ناتوانوں بے مالکوں کا مالک ہے جسکا محافظ آپ خڈا ہے اسکو مار یگا کون ۔ مرتا ہے جس نے اپنے دل سے بھلائیا ہے ۔
دامن خدا کا چھوڑ کر کہاں کوئی جائیگا۔ سب کے سر پر خ پاک خدا ہے ۔ سایہ اسکا رحمت ہے ۔ سب جانداروں کی زندگی کا راز خدا کے ہاتھ میں ہے ۔ ہر جا وہ سب کا ساتھی ہے ۔ سب اوصافوں کا خزانہ ہے ۔ وہ بیشمار لا محدود ہے وہ خادم نانک ہمیشہ قربان ہے اس پر ۔

پوُرن پوُرِ رہے دئِیال ॥
سبھ اوُپرِ ہوۄت کِرپال ॥
اپنے کرتب جانےَ آپِ ॥
انّترجامیِ رہِئو بِیاپِ ॥
پ٘رتِپالےَ جیِئن بہُ بھاتِ ॥
جو جو رچِئو سُ تِسہِ دھِیاتِ ॥
جِسُ بھاۄےَ تِسُ لۓ مِلاءِ ॥
بھگتِ کرہِ ہرِ کے گُنھ گاءِ ॥
من انّترِ بِس٘ۄاسُ کرِ مانِیا ॥
کرنہارُ نانک اِکُ جانِیا ॥੩॥
لفظی معنی:
پورن۔ مکمل۔ پور رہے ۔ ہر جائی ہے ۔ دیال۔ مہربان۔ کرتب۔ کام۔ انتر جامی ۔ راز دلی جاننے والا۔ ویاپ ۔ بستا ہے ۔ پر تپالے ۔ پرورش کرتا ہے ۔ دھیات ۔ یاد رکھتا ہے ۔ ہر کے گن گائے ۔ الہٰی حمدوچناہ ۔ بسواس۔ یقین ۔ کرنہار۔ کار ساز ۔ کرتار ۔ کرنے والا۔
ترجمہ معہ تشریح:
سب پر مہربان خدا ہرجائی ہے ۔ سب پر رحمت کی بارش کرتا ہے ۔ اپنے کاموں سے خود ہی واقف راز دلی جانتا ہے اور سب میں نور اسی کا ہے بہت سے طریقوں سے جانداروں کی پرورش کرتا ہے ۔ جو اس نے کئے ہیں پیدا یا وہ سے ہو کرتے ہیں۔ جو کرتے ہیں حمد خدا کی اور الہٰی عاشق ہین۔ ان پر اپنی خوشنودی سے اپنے ساتھ ملاتا ہے ۔ اے نانک۔ جس نے عقیدتمندی سے خدا کو دلمیں بسائیا ہے ۔ اس نے کار ساز کرتار خدا پہچانا ہے

جنُ لاگا ہرِ ایکےَ ناءِ ॥
تِس کیِ آس ن بِرتھیِ جاءِ ॥
سیۄک کءُ سیۄا بنِ آئیِ ॥
ہُکمُ بوُجھِ پرم پدُ پائیِ ॥
اِس تے اوُپرِ نہیِ بیِچارُ ॥
جا کےَ منِ بسِیا نِرنّکارُ ॥
بنّدھن تورِ بھۓ نِرۄیَر ॥
اندِنُ پوُجہِ گُر کے پیَر ॥
اِہ لوک سُکھیِۓ پرلوک سُہیلے ॥
نانک ہرِ پ٘ربھِ آپہِ میلے ॥੪॥
لفظی معنی:
ہر ۔ خدا۔ ایکے نائے ۔ واحد نام میں۔ آس۔ اُمید ۔ برتھی ۔بیکار۔ بیفائدہ ۔ پرم پد۔ اونچا رتبہ ۔ اس سے اوپر۔ اس سے نیک بلند۔ بندھن۔ غلامی ۔ نرویر ۔ بلا دشمنی ۔ پوچو ۔ پرستش کرؤ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کی واحد خدا کے نام سے ہے محبت اُمید اس کی بیفائدہ جاتی نہیں۔ خادم خدا کے لئے لازم ہے خدمت فرمان الہٰی سمجھنے سے بلند رتبے ملتے ہیں۔ اس سے بلند نہیں خیال کوئی سمجھ کوئی جس کے دل میں بس گیا پاک خدا۔ ذہنی غلامی کی بندشیں توڑ کر کسی سے دشمنی نہ رہی ایسے اعلے مرشد کے پاوں کی کرو پرستش ۔ ہر دو عالم میں سکھہ پاؤ گے ۔ نانک۔ ایسے خادم کو وصل خدا کا ملتا ہے او ر خدا خود اسکا وصل دینا چاہتا ہے ۔

سادھسنّگِ مِلِ کرہُ اننّد ॥
گُن گاۄہُ پ٘ربھ پرماننّد ॥
رام نام تتُ کرہُ بیِچارُ ॥
د٘رُلبھ دیہ کا کرہُ اُدھارُ ॥
انّم٘رِت بچن ہرِ کے گُن گاءُ ॥
پ٘ران ترن کا اِہےَ سُیاءُ ॥
آٹھ پہر پ٘ربھ پیکھہُ نیرا ॥
مِٹےَ اگِیانُ بِنسےَ انّدھیرا ॥
سُنِ اُپدیسُ ہِردےَ بساۄہُ ॥
من اِچھے نانک پھل پاۄہُ ॥੫॥
لفظی معنی:
صحبت پاکدامن سے حاسل کرو سکون ۔ انند۔ کوشی ۔ سرور ۔ پر مانند۔ جسے سے بلند خوشی حاصل ہے ۔ تت۔ اصل۔ حقیقت۔ ادھار۔ بچاؤ۔ انمرت بچن۔ زندگی عنایت کرنے والا کلام ۔ سنوارنے والا کلام۔ پران ترن۔ زندگی کامیابی ۔سواؤ۔ ذریعہ ۔ وسیلہ ۔ طریقہ ۔ پیکھو ۔ دیکھو ۔ تیرا ۔ نزدیک۔ ساتھ۔ اگیان۔ جہالت۔ لا علمی ۔ اپدیس ۔ نصیحت ۔ سبق ۔ ہدایت۔ ہر دے بسا د ہو ۔ ذہن نشین کرؤ ۔ اچھے ۔ خواہش۔
ترجمہ معہ تشریح:
صحبت پاکدامن پاکر حاصل کرؤ خوشی۔ حمدوثناہ کرؤ بھاری خوشیاں والے کی ۔ الہٰی نام ہے ۔ ایک حقیقت اس کی کرؤ ویچار ۔ نایاب ملتی ہے ۔ زندگی اس کو خوب سنوارو آپ ۔ الہٰی حمدوثناہ سے ملتی ہے زندگی یہ ہے آبحیات کا خدا۔ زندگی کامیاب بنانیکا یہی طریقہ اور یہی سلیقہ ہے ۔ ہر دم خدا کو ساتھی سمجھو۔ اس سے جہالت جاتی ہے اور نا سم مجھی کا اندھیرا کا نور ہو جاتاہے ۔ واعظ سنو اور دل میں بساؤ اس سے اے نانک۔ دل کی خواہش کے پھل پاؤ گے ۔

ہلتُ پلتُ دُءِ لیہُ سۄارِ ॥
رام نامُ انّترِ اُرِ دھارِ ॥
پوُرے گُر کیِ پوُریِ دیِکھِیا ॥
جِسُ منِ بسےَ تِسُ ساچُ پریِکھِیا ॥
منِ تنِ نامُ جپہُ لِۄ لاءِ ॥
دوُکھُ دردُ من تے بھءُ جاءِ ॥
سچُ ۄاپارُ کرہُ ۄاپاریِ ॥
درگہ نِبہےَ کھیپ تُماریِ ॥
ایکا ٹیک رکھہُ من ماہِ ॥
نانک بہُرِ ن آۄہِ جاہِ ॥੬॥
لفظی معنی:
ہلت پلت۔ دونوں عالموں میں زندگی کا موجودہ دور مییں او ر موت کے بعد کی زندگی ۔ انتر اردھار۔ ذہن نشین کرکے ۔ دلمیں بسا کر۔ پورے گر ۔ کامل مرشد ۔ پوری دیکھیا۔ کامل سبق۔ کام ل نصیحت ۔ ساچ پریکھیا۔ پرکھ ۔ حقیقت کی سمجھ ۔ بھو۔ خوف۔ سچ واپار۔ چونکہ زندگی ایک نایاب اور قیمتی شے ہے اس لئے اسکا سچا اور سچی زندگی کو نہایت پاک بناو۔ درگیہہ۔ دربار الہٰی ۔ کھیپ ۔ سودا ۔ تھہے ۔ قبول ہوجائے ۔ پایہ تکمیل تک پہن جائے ۔ ایکا۔ واحد۔ ٹیک۔ آسرا۔ بہورنہ اویہہ جاہے ۔ تناسخ میں نہ رہو۔
ترجہ
عالم الہٰی لد میں بسا کر دونوں عالم سنوار جاتے ہیں ۔ کامل مرشد کا سبق مکمل ہوتا ہے ۔ جس کے دل میں بس جائے سچا امتحان ہے اسکا س چی سمجھ ہوجاتی ہے ۔ دل وجان سے یاد کرؤ خدا کو عذاب اور خوف مٹ جاتا ہے ۔ اے زندگی کے سوداگرو زندگی کا سچا سودا کرؤ جس سے بارگاہ الہٰی میں زندگی کے اس مقصق کی قدرو منزلت حاصل ہو۔ نانک دل میں واحد کدا کا آسرا لو تاکہ تمہارے تناسخ مٹ جائے ۔

تِس تے دوُرِ کہا کو جاءِ ॥
اُبرےَ راکھنہارُ دھِیاءِ ॥
نِربھءُ جپےَ سگل بھءُ مِٹےَ ॥
پ٘ربھ کِرپا تے پ٘رانھیِ چھُٹےَ ॥
جِسُ پ٘ربھُ راکھےَ تِسُ ناہیِ دوُکھ ॥
نامُ جپت منِ ہوۄت سوُکھ ॥
چِنّتا جاءِ مِٹےَ اہنّکارُ ॥
تِسُ جن کءُ کوءِ ن پہُچنہارُ ॥
سِر اوُپرِ ٹھاڈھا گُرُ سوُرا ॥
نانک تا کے کارج پوُرا ॥੭॥
لفظی معنی:
تس تے ۔ اس سے مراد خدا۔ کہا ۔ کہاں۔ کو ۔ کوئی ۔ ابھرے ۔ بچتا ہے ۔ راکھنہار ۔ رکھنے والا۔ دھایئے ۔ یاد کرنے سے ۔ نربھو۔ بیخوف۔ سگل۔بھو۔ سارے خوف۔ پرائی ۔ انسان۔ اہنکار ۔ تکبر۔ غرور۔ بپہچا۔ برا بر۔ ٹھاڈا۔ کھڑا۔ گر سور۔ بہادر مرشد۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کا در چھوڑ کر اے انسان کہاں تم جاؤ گے بچو گے تبھی جب بچانےوالے میں دھیان لگاؤ گے ۔ بیخوف الہٰی یاد سے سب خوف دور ہوجاتے ہیں۔ رحمت خدا سے انسان ذہنی غلامی سے نجات پاتے ہیں۔ جس کا خد خود محافظ ہو ت عذاب کب آتا ہے نام خدا کے جپنے سے انسان آسائش پاتا ہے ۔ ہوتا ہے دور تکبر فکر ختم ہوجاتے ہیں۔ رتبہ نہیں برابر اس کے کسی کا وہ سردار ہوجاتے ہیں جس کے سر پر سایہ ہو مرشد و یر بہادر کا اے نانک۔ کام ہونگے سب پورے اس کے حاصل مقصد ہوگا۔

متِ پوُریِ انّم٘رِتُ جا کیِ د٘رِسٹِ ॥
درسنُ پیکھت اُدھرت س٘رِسٹِ ॥
چرن کمل جا کے انوُپ ॥
سپھل درسنُ سُنّدر ہرِ روُپ ॥
دھنّنُ سیۄا سیۄکُ پرۄانُ ॥
انّترجامیِ پُرکھُ پ٘ردھانُ ॥
جِسُ منِ بسےَ سُ ہوت نِہالُ ॥
تا کےَ نِکٹِ ن آۄت کالُ ॥
امر بھۓ امرا پدُ پائِیا ॥
سادھسنّگِ نانک ہرِ دھِیائِیا ॥੮॥੨੨॥
لفظی معنی:
مت۔ عقل۔ سمجھ۔ درشٹ۔ نظریہ۔ نگاہ۔ انمرت۔ آب حیات۔ زندگی کو پاک بنانے والا پانی ۔ درشن۔ دیدار۔ پیکھت ۔ دیکھنے سے ۔ سر شٹ۔ عالم ۔ دنیا ۔ جہان ۔ ادھرت۔ بچاؤ۔ سہارا ۔ انوپ ۔ انوکھے نراے ۔ سپھل۔ ہرآور ۔ پھل دینے والے ۔ سندر۔ خوبصورت ۔ روپ شکل۔ دھن۔ شاباش۔ مبار ۔ سیوا۔ خدمت۔ سیوک۔ خدمتگار۔ انتر جامی ۔ اندرونی راز جاننے والا۔ پرکہہ۔ انسان۔ پر دھان۔ مقبول۔ نہال خوش۔ نکٹ۔ نزدیک۔ کال۔موت۔ امر۔ صدیوی ۔ پد ۔ رتبہ۔ درجہ ۔ سادھ سنگ۔ پاکدامن کے ساتھ دھیائیا۔ یاد کیا۔
ترجمہ معہ تشریح:
کامل عقل شفقت بھرا نظریہ اور نقطہ نگاہ جس کا جس کے دیدار سے عالم بچ جاتا ہے جسکا عالم کو سہارا ہے ۔ جس کے پاؤں نرالے اور انوکھے ہیں۔ کنول جیسے پاک ہیں دیدار برآور خدا کی شکل وصورت ہے ۔ ذہنی راز سے ہے واقف اور سب کا رہبر ہے ۔ مقبول بھی ہے جس کے دلمیں بساجاتا ہے وہ خوشیاں پاتا ہے ۔ روحانی وت اس کے نزدیک نہ پھٹکے صدیوی وہ ہوجاتا ہے ۔ اے نانک جو پاکداموں عارفوں ک صحبت میں یاد خدا کرتے ہیں۔ صدیوی وہ ہوجاتے ہیں اور صدیوی رتبہ پاتے ہیں۔

سلوکُ ॥
گِیان انّجنُ گُرِ دیِیا اگِیان انّدھیر بِناسُ ॥
ہرِ کِرپا تے سنّت بھیٹِیا نانک منِ پرگاسُ ॥੧॥
لفظی معنی:
گیان۔ علم ۔ انجن۔ سرمہ ۔ گر۔ مرشد۔ اگیان۔ لا علمی ۔ جہالت۔ وناس۔ مٹانا۔ ہر ۔ خدا۔ کرپا۔ مہربانی ۔ شفقت۔ بھیٹیا ۔ ملاپ ہوا۔ پر گاس۔ روشن۔
ترجمہ معہ تشریح:
مرشد جسے علم کا سرمہ عنایت کرتا ہے ۔ لا علمی اور جہالت کا اندھیرا کا فور ہوجاتا ہے ۔ الہٰی عنایت و شفقت سے خدا رسیدہ ہے سے ملاپ ہوا۔ اے نانک من اور ذہن روشن ہوا۔

اسٹپدیِ ॥
سنّتسنّگِ انّترِ پ٘ربھُ ڈیِٹھا ॥
نامُ پ٘ربھوُ کا لاگا میِٹھا ॥
سگل سمِگ٘ریِ ایکسُ گھٹ ماہِ ॥
انِک رنّگ نانا د٘رِسٹاہِ ॥
نءُ نِدھِ انّم٘رِتُ پ٘ربھ کا نامُ ॥
دیہیِ مہِ اِس کا بِس٘رامُ ॥
سُنّن سمادھِ انہت تہ ناد ॥
کہنُ ن جائیِ اچرج بِسماد ॥
تِنِ دیکھِیا جِسُ آپِ دِکھاۓ ॥
نانک تِسُ جن سوجھیِ پاۓ ॥੧॥
لفظی معنی:
سنت سنگ ۔ صحبت عارفان ۔ انتر۔ دلمیں۔ پرتھ ۔ خدا۔ ڈیٹھا۔ دیدار کیا۔ سگل۔ ساری۔ سمگری ۔ قائنات عالم ۔ ایکس گھٹ ماہے ۔ واحد خدا میں ۔ ڈیٹھا۔ دیدار کیا ۔ وسرام۔ ٹھکانہ ۔ انک رنگ ۔ بیشمار حالتوں میں۔ نانا درسٹا ہے ۔ علیحد ہ علیحدہ کئی طرح سے دکھائی دیتے ہیں۔ نوندھ۔ نو خزانے ۔ انمرت ۔ آب حیات۔ پربھ۔ خدا۔ سن سمادھ ۔ بے حس۔ حرکت دھیان۔ انحت۔ حت۔ آحت۔ آداز۔ انحت بے آواز۔ لگاتار۔ تیہہ۔ وہ ۔ اد۔ آزاد۔ گانا۔ اچرج۔ حیران کرنے والی ۔ ( انوکھی ) ۔ بسماد۔ حیران کرنے والی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
صحبت عارفان سے دیدار الہٰی پائیا اپنے ہی دل میں اور نام الہٰی دل کو بھائیا ۔ قائنات ساری ہے اس وحدت کے اندر بیشمار رنگوں اور نظاروں میں نظریہ ذہن ۔ نو خوازنے اور آب حیات ہے نام الہٰی۔ جو جسم انسانی میں بستا ہے ۔ او ر ٹھکانہ ہے ۔ بے حس و حرکت بغیر خیالوں کو بے آواز ہے ۔ اس کی ۔ ایسا متواتر سنگیت حیران کرنے والی حیرانی جو بیان سے باہر ہے ۔ دیدار انہیں ہی ہوتا ہے ۔ جنہیں خود خود دیار کراتا ہے ۔ اے نانک۔ اس خادم کو سمجھ آجاتی ۔

سو انّترِ سو باہرِ اننّتُ ॥
گھٹِ گھٹِ بِیاپِ رہِیا بھگۄنّت ॥
دھرنِ ماہِ آکاس پئِیال ॥
سرب لوک پوُرن پ٘رتِپال ॥
بنِ تِنِ پربتِ ہےَ پارب٘رہمُ ॥
جیَسیِ آگِیا تیَسا کرمُ ॥
پئُنھ پانھیِ بیَسنّتر ماہِ ॥
چارِ کُنّٹ دہ دِسے سماہِ ॥
تِس تے بھِنّن نہیِ کو ٹھاءُ ॥
گُر پ٘رسادِ نانک سُکھُ پاءُ ॥੨॥
لفظی معنی:
سو۔ وہ ۔ انتر۔ دلمیں۔ باہر۔ عالم میں۔ انت۔ بیشمار۔ گھٹ گھٹ ۔ ہر دلمیں۔ ۔ دیاپ ۔ بستا ہے ۔ بھگونت ۔ خدا۔ تقدیر ساز ۔ دھرن۔ زمین۔ آکاس۔ آسان۔ پیال۔ پاتال۔ سرب لوک ۔ سارے لوگوں میں ۔ پورن ۔ پرتپال۔ مکمل ۔ پرودگار۔ پرورش کرنے والا۔ جن ۔ جنگل۔ تن۔ تنکا ۔ گھاس۔ پربت۔ پہاڑ۔ کرم۔ اعمال۔ چارکنٹ۔ چاروں طرفوں میں۔ دیہہ دسے ۔ ہرجا ۔ سماہے ۔ بستا ہے ۔ بھن۔ جدا۔ ٹھا ؤ۔ ٹھکانہ ۔ گر پرساد۔ رحمت مرشد سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جو انسانی دلمیں ہے باہر بھی وہی ہے ۔ بیشمار خدا ہر دلمیں بستا ہے ۔ تقدیروں کا مالک خدا۔ زمین آسمان اور پاتال میں ہے ۔ سارے لوگوں کن کا مکمل پرورش کرنے والا ہے ۔
جنگل تنکے اور پہاڑوں میں ہے پاک خدا۔ جیسا جیسا ہے فرمان الہٰی ویسا ہی اعمال ہوتا رہتا ہے ۔ آگ ہوا۔ اور پانی میں چاروں طرف اور ہر جگہ نور الہٰی ہے ۔ بغیر نہیں اس کے کوئی جا ۔ ہر جا وہ بستا ہے ۔ رحمت مرشد سے نانک کہہ ملتا ہے ۔

بید پُران سِنّم٘رِتِ مہِ دیکھُ ॥
سسیِئر سوُر نکھ٘ز٘زت٘ر مہِ ایکُ ॥
بانھیِ پ٘ربھ کیِ سبھُ کو بولےَ ॥
آپِ اڈولُ ن کبہوُ ڈولےَ ॥
سرب کلا کرِ کھیلےَ کھیل ॥
مولِ ن پائیِئےَ گُنھہ امول ॥
سرب جوتِ مہِ جا کیِ جوتِ ॥
دھارِ رہِئو سُیامیِ اوتِ پوتِ ॥
گُر پرسادِ بھرم کا ناسُ ॥
نانک تِن مہِ ایہُ بِساسُ ॥੩॥
لفظی معنی:
سیر ۔ چندر ما۔ سور۔ سورج ۔ نکھتر۔ تارے ۔ بانی پر بھکی ۔ کلام الہٰی۔ ڈول۔ بلا لرزش۔ بلا ڈمگگائے ۔ سرب۔ تمام۔ کلا۔ طاقتوں۔ گنیہہ امول۔ بے مول۔ بے قیمت ۔ اوصاف۔ سرب جوت۔ تمام نوروں۔ اوت پوت۔ تانے پیٹے کی مانند۔ بھرم۔ شک و شبہات۔ باس ۔ یقین۔ بھروسا ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ویدوں پرانوں سمرتیوں کا مطالعہ کر دیکھتا ہے ۔ چاند سورج اور تاروں میں ہے نور اسی کا اس کے نور سے ان کا اُجالا ہے ۔ ہر ایک کلام الہٰی کہتاہ ے ۔ بے لرزش ہے وہ نہ لزش میں آتا ہے ۔ سب طاقتوں سے ہے مرقع اور ہے علام میں اپنی کھیل کھیل رہا۔ اوصاف کے اس کی کوئی قیمت پا سکتا نہیں۔ سب نوروں میں نور ہے اسکا تانے پیٹے کی مانند سب میں وہ بستا ہے ۔ اے نانک جنہں بھروسا ہوجاتا ہے ان کے شک و بہات سے ختم ہوجاتے ۔

سنّت جنا کا پیکھنُ سبھُ ب٘رہم ॥
سنّت جنا کےَ ہِردےَ سبھِ دھرم ॥
سنّت جنا سُنہِ سُبھ بچن ॥
سرب بِیاپیِ رام سنّگِ رچن ॥
جِنِ جاتا تِس کیِ اِہ رہت ॥
ستِ بچن سادھوُ سبھِ کہت ॥
جو جو ہوءِ سوئیِ سُکھُ مانےَ ॥
کرن کراۄنہارُ پ٘ربھُ جانےَ ॥
انّترِ بسے باہرِ بھیِ اوہیِ ॥
نانک درسنُ دیکھِ سبھ موہیِ ॥੪॥
لفظی معنی:
پیکھن ۔ دیکھنا۔ ہردے ۔ دلمیں۔ دھرم۔ انسانی فرائض۔ سبھ ۔ نیک ۔ بچن۔ گفتار۔ کلام۔ رچن۔ ملاپ ۔ جاتا ۔ پہچانا۔ رہت ۔ روزمرہ کی طرز زندگی ۔ ست۔ سچے ۔ موہی ۔ محبت میں گرفتار ۔
ترجمہ معہ تشریح:
عارفان الہٰی کی نظر ہر وقت خدا پر پڑتی ہے ۔ عارفان الہٰی ی دل میں فرض انسانی بستے ہیں۔ عارفان الہٰی سنتے ہیں نیک کلام ہرجاہے جسکا نور سار جہاں نورانی ہے ۔ اس سے ہے رشتہ ناطہ اسی میں مجذوب ہین وہ ۔ جس نے پہچان لیا خدا کو روز مرہ کی زندگی ایسی ہوجاتی ہے ۔ کہ ہمیشہ زبان سے سچے بول ہیں بولتے ۔ جو ہو رہا ہے اسے ہی سکھ سمجھتے ہیں۔ سب کچھ کرنے اور کرانے والا خدا کو ہی مانتے ہیں۔ ہر دلمیں وہی بستا ہے ۔ جر عارفان کی نگاہ خدا پر دلمیں بھی وہ باہر بھی وہ اے نانک۔ دیدار سے اس کے سارا علام محو ہوجاتا ہے ۔

آپِ ستِ کیِیا سبھُ ستِ ॥
تِسُ پ٘ربھ تے سگلیِ اُتپتِ ॥
تِسُ بھاۄےَ تا کرے بِستھارُ ॥
تِسُ بھاۄےَ تا ایکنّکارُ ॥
انِک کلا لکھیِ نہ جاءِ ॥
جِسُ بھاۄےَ تِسُ لۓ مِلاءِ ॥
کۄن نِکٹِ کۄن کہیِئےَ دوُرِ ॥
آپے آپِ آپ بھرپوُرِ ॥
انّترگتِ جِسُ آپِ جناۓ ॥
نانک تِسُ جن آپِ بُجھاۓ ॥੫॥
لفظی معنی:
ست۔ سچ ۔ صڈیوی ۔ اتپت۔ پیدائش۔ دستھار۔ پھیلاؤ ۔ اینکار واحد۔ انک۔ بیشمار۔ کلا۔ طاقت۔ ہکی ۔ تحریر ۔ شمار۔ نکٹ۔ نزدیک۔ بھر پور ۔ مکمل ۔ کامل۔ انتر گت۔ اندرونی بلند حالت۔ جنائے ۔ سمجھائے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سچا ہے آپ خدا اعمال بھی اس کے سچے ہیں۔ اسی خدا نے ساری دنیا ہوئی ہے پیدا۔ جب چاہتا ہےع الم کو پھیلاتا ہے جب چاہتا ہے واحد رہ جاتا ہے ۔ طاقت لا محدود کا مالک کیسے اسے تحریر کریں جسے چاہتا ہے ساتھ ملاتا ہے ۔ کسے نزدیک کہیں کسے دور کہں اپنے بھی آپ مکمل ہے ۔ ہر شے میں ہے نور اسکا۔ جس انسان کو اپنی ہستی سمجھاتا ہے ۔ اے نانک اسے راز الہٰی آجاتا ہے ۔

سرب بھوُت آپِ ۄرتارا ॥
سرب نیَن آپِ پیکھنہارا ॥
سگل سمگ٘ریِ جا کا تنا ॥
آپن جسُ آپ ہیِ سُنا ॥
آۄن جانُ اِکُ کھیلُ بنائِیا ॥
آگِیاکاریِ کیِنیِ مائِیا ॥
سبھ کےَ مدھِ الِپتو رہےَ ॥
جو کِچھُ کہنھا سُ آپے کہےَ ॥
آگِیا آۄےَ آگِیا جاءِ ॥
نانک جا بھاۄےَ تا لۓ سماءِ ॥੬॥
لفظی معنی:
سرب۔ سارے ۔ بھوت۔ جاندار۔ درتار۔ جو برتاؤ ہو رہا ہے ۔ سرب نین ۔ سارے آنکھیں۔ پیکھنہار۔ دیکھنے والا۔ سگل سمگری ۔ ساری قائنات ۔ تنا ۔ جسم۔ اگیا کاری ۔ زیر فرمان ۔ مدھ ۔ درمیان۔ الپت ۔ بیلاگ۔ بلاتا ثر۔ سمائے ۔ مجذوب کر لیتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
سب جانداروں میں الہٰی نور ہے ۔ساری آنکھوں میں ہے خود ہی ہے دیکھ رہا۔ ساری قائنات اسکا جسم ہے اور اپنی تعریف حمدوہ خود ہی سننے والا ہے ۔ پیدا ہونا اور موت اسکا ایک کھیل ہے ۔ زیر فرمان دنیاوی دولت ساری ہے ۔ سب میں بستے ہوئے بیلاگ بلا تاثر ہے وہ ۔ جو کچھ کہنا ہے خو دہی کہتا ہے وہ ۔ الہٰی رضا سے آتا ہے انسان الہٰی رضا سے چلا جاتا ہے ۔ا ے نانک جس نے چاہتا ہے مجذوب کر لیتا ہے ۔

اِس تے ہوءِ سُ ناہیِ بُرا ॥
اورےَ کہہُ کِنےَ کچھُ کرا ॥
آپِ بھلا کرتوُتِ اتِ نیِکیِ ॥
آپے جانےَ اپنے جیِ کیِ ॥
آپِ ساچُ دھاریِ سبھ ساچُ ॥
اوتِ پوتِ آپن سنّگِ راچُ ॥
تا کیِ گتِ مِتِ کہیِ ن جاءِ ॥
دوُسر ہوءِ ت سوجھیِ پاءِ ॥
تِس کا کیِیا سبھُ پرۄانُ ॥
گُر پ٘رسادِ نانک اِہُ جانُ ॥੭॥
لفظی معنی:
اورے ۔ اس کے بغیر۔ کنے ۔ کس نے ۔ بھلا۔ نیک۔ کر توت۔ اعمال۔ ات ۔ نہایت ۔ نیکی ۔ اچھی ۔ جی ۔ دل۔ آپ ساچ دھاری سب ساچ ۔ آپ سماہے ۔ ارادے سچے ہیں۔ اور آپس میں تانے پیٹے کی مانند یکسو ہوا ہوا ہے ۔ اس کی ہستی کا اندازہ ہو نہیں سکتا لا محدود ہے وہ اگر وہ اس کے علاہو کوئی دیگر تو سمجھیں اسے ۔ جو کچھ کرتا ہے خدا مقبول ہوجاتا ہے ۔ منظو ر ہوجاتا ہے ۔ اے انسان اے نانک رحمت مرشد سے کر پہچان۔ ( نوٹ ۔ ترجمہ معہ تشریح: مشمولہ ورق بنتا ہے )

جو جانےَ تِسُ سدا سُکھُ ہوءِ ॥
آپِ مِلاءِ لۓ پ٘ربھُ سوءِ ॥
اوہُ دھنۄنّتُ کُلۄنّتُ پتِۄنّتُ ॥
جیِۄن مُکتِ جِسُ رِدےَ بھگۄنّتُ ॥
دھنّنُ دھنّنُ دھنّنُ جنُ آئِیا ॥
جِسُ پ٘رسادِ سبھُ جگتُ ترائِیا ॥
جن آۄن کا اِہےَ سُیاءُ ॥
جن کےَ سنّگِ چِتِ آۄےَ ناءُ ॥
آپِ مُکتُ مُکتُ کرےَ سنّسارُ ॥
نانک تِسُ جن کءُ سدا نمسکارُ ॥੮॥੨੩॥
لفظی معنی:
اوہ ۔ وہ ۔ دھنونت۔ دولتمند۔ کلونت ۔ نیک خاندان ۔ پتونت ۔ با عزت ۔ باوقار۔ جیون مکت۔ دوڑان۔ حیات ذہنی غلای و دنیاوی غلامیوں سے آزاد۔ جس پر ساد ۔ جس کی رحمت سے ۔ سوآؤ ۔ منورتھ ۔ مقصد۔ جن ۔ خادم۔ خدا۔ انسان
ترجمہ معہ تشریح:
جسکا خدا نے رشتہ پیدا ہوجاتا ہے ہمیشہ آرام و آسائش پاتا ہے ۔ خدا اسے مجزوب کر لیتا ہے وہ دولتمند نیک خاندان ، با عزت با وقار ہوجاتا ہے ۔ جس کے دلمیں خدا بس جائے وہ دوران حیات ہی ذہنی و دنیاوی غلامیوں سے آزاد ہوجاتا ہے ۔ مبارکباد ہے ایسے انسان کے اس دنیا میں جنم لینے پر جس کی رحمت سے سارا عالم ہی کامیابیاں پاتا ہے ۔ انسان کا پیدا ہونے کا مدعا و مقصد یہی ہے ایسے انسان کی صحبت سے خدا کا نام سچ حق و حقیقت یاد آتا ہے ۔ وہ خود آزادی حاصل کرتا ہے اور عالم کو آزاد کراتا ہے ۔۔ اے نانک ایسے انسان کو ہمیشہ سر جھکاتاہوں۔ سجدہ کرتا ہوں سلام کہتا ہوں۔ جو خود نجات یافتہ ہے اور عوام کو نجات دلاتا ہے ۔

سلوکُ ॥
پوُرا پ٘ربھُ آرادھِیا پوُرا جا کا ناءُ ॥
نانک پوُرا پائِیا پوُرے کے گُن گاءُ ॥੧॥
لفظی معنی:
پورا برھ ۔ کامل خدا۔ ۔ پورا جا کا ناؤں۔ جسکا نام بھی مکمل ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس نے کامل خدا کو جسکا نام کاملہے ایسے کامل نام والے خدا کی عبادت و ریاضت کی ہے ۔ ایسے اے نانک۔کامل کی حمدوثناہ کرؤ۔

اسٹپدیِ ॥
پوُرے گُر کا سُنِ اُپدیسُ ॥
پارب٘رہمُ نِکٹِ کرِ پیکھُ ॥
ساسِ ساسِ سِمرہُ گوبِنّد ॥
من انّتر کیِ اُترےَ چِنّد ॥
آس انِت تِیاگہُ ترنّگ ॥
سنّت جنا کیِ دھوُرِ من منّگ ॥
آپُ چھوڈِ بینتیِ کرہُ ॥
سادھسنّگِ اگنِ ساگرُ ترہُ ॥
ہرِ دھن کے بھرِ لیہُ بھنّڈار ॥
نانک گُر پوُرے نمسکار ॥੧॥
لفظی معنی:
پورے گر ۔ کامل مرشد۔ اپدیس ۔ واعظ ۔ سبق ۔ نصیحت۔ پار برہم۔ پار لگانے والا۔ کامیابت بنانے والا۔ خدا۔ نکٹ ۔ نزدیک۔ پیکھ ۔ دیکھ ۔ سمر۔ یاد کر ۔ چند۔ فکر ۔ آس۔ امید ۔ انت۔ جو ہر روز نہ رہے ۔ جو صدیوی نہ ہو ۔ تیاگہو ۔ چھوڑ دو ۔ ترنگ ۔ ذہنی خیال کی لہریں ۔ آپ ۔ خودی ۔ سادھ سنگ۔ صحب پاکدامن میں۔ اگن ساگر ۔ آک کا سمندر۔ یہ جہاںجو خواہشات انسانی کی آگ ہے ۔ ہر دھن۔ الہٰی خوشنودی ۔ بھندآر۔ خزانے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
کامل مرشد کا سبق سنو انسانوں جو تجھ سے کہت اہے ۔ پاک خدا کو ساتھ ہی سمجھو جو ساتھ تمہارے رہتا ہے ۔ ہر دم ہر وقت خدا کو یاد کرؤ تاکہ دل کا فکر تمہارے مٹ جائے فکر ہوجائے دور۔ جو ہر روز رہیں الہٰی امیدیں چھوڑو چھوڑ دل کے خیالات کی لہروں کو اور پاکدامن عارفوں کی دہول مانگو ۔ خودی چھوڑو عرض گذارو ار سحبت و قربت پاکدامناں سے اس دنیا وی سمندر سے پار ہوجاؤ ۔ یعنی اس خوفناک دشوار عالم سے اپنی زندگی پاکیزہ اور کامیاب بناؤ۔ اے نانک۔ الہٰی نام کے سچ کے خزانے بھر لو اور کامل مرشد کا اداب کرؤ۔ سجدہ کرؤ ۔سرجھاؤ اور سلام کہو۔

کھیم کُسل سہج آننّد ॥
سادھسنّگِ بھجُ پرماننّد ॥
نرک نِۄارِ اُدھارہُ جیِءُ ॥
گُن گوبِنّد انّم٘رِت رسُ پیِءُ ॥
چِتِ چِتۄہُ نارائِنھ ایک ॥
ایک روُپ جا کے رنّگ انیک ॥
گوپال دامودر دیِن دئِیال ॥
دُکھ بھنّجن پوُرن کِرپال ॥
سِمرِ سِمرِ نامُ بارنّ بار ॥
نانک جیِء کا اِہےَ ادھار ॥੨॥
لفظی معنی:
کھیم کسل ۔ خوشحالی ۔ سیج ۔ روحانی سکون ۔ آنند۔ روحانی تسکین۔ پر مانند ۔ سکون روحانی کی بلندی ۔ نرک ۔ دوزخ۔ نوار ۔ دور کرکے ۔ اُدھار ہو ۔ بچاؤ۔ جیو ۔ زندگی گذارو۔ گن گوبند۔ اوصاف الہٰی ۔ انمرت رس۔ آبحیات کا لطف۔ چت چتو ہو ۔ دلمیں سوچو۔ نارائن ایک۔ وحدت الہٰی کی بابت۔ دکہہ بھنجن۔ عذاب مٹانے والا۔ پورن ۔ کرپال۔ مکمل مہربان۔ جیئہ کا اہے ادھار۔ زندگی کے لئے یہی سہارا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
پاکدامن عارفوں کی صحبت و قربت میں یاد کر و اس پاک خدا کو خوشحال و روحانی سکون اور خوشی ی پاؤ گے ۔ حمدوثناہ کرؤ خدا کی اور آبحیات زندگی کے مزے ۔ دوزخ سے زندگی کو بچاؤ۔ دل میں سوچو واحد خدا کو جو واحد ہے مگر رنت و اشکال ہیں جدا جدا ۔ مہربان ہے جو غریبوں پر ۔ جو مالک ہے عالم کا عزاب مٹانے والا ہے ۔ رحمت کرنے میں کامل ہے ۔ اے نانک یادکرؤ بار بار خدا کو زندگی کا یہی سہارا ہے ۔

اُتم سلوک سادھ کے بچن ॥
امُلیِک لال ایہِ رتن ॥
سُنت کماۄت ہوت اُدھار ॥
آپِ ترےَ لوکہ نِستار ॥
سپھل جیِۄنُ سپھلُ تا کا سنّگُ ॥
جا کےَ منِ لاگا ہرِ رنّگُ ॥
جےَ جےَ سبدُ اناہدُ ۄاجےَ ॥
سُنِ سُنِ اند کرے پ٘ربھُ گاجےَ ॥
پ٘رگٹے گُپال مہاںت کےَ ماتھے ॥
نانک اُدھرے تِن کےَ ساتھے ॥੩॥
لفظی معنی:
اتم ۔ بلند پایہ ۔ سلوک ۔ حمدوثناہ کے گیت یا نظم املیک ایسے بیش قیمت جس کی قیمت مقرر نہ ہو سکے ۔ رتن۔ ہیرے ۔ سنت۔ سننے سے ۔ کماوت ۔ اس پر عمل کرنےس ے ۔ ادھار۔ بچاؤ۔ نستار ۔ کامیاب۔ سپھل۔ برآور ۔ کامیاب۔ سنگ ۔ ساتھ۔ ہر رنگ۔ الہٰی پیار۔ بے بے ۔ فتح فتح۔ شبد ۔ کلام۔ اناحد۔ بغیر رکے ۔ پربھ گاجے ۔ گرجتا ہے ۔ پرگٹے ۔ ظہور میں آئے ۔ مہانت۔ بلند روح۔ ماتھے ۔ پیشانی پر ۔ ادھرے ۔ بچے ۔ ساتھے ۔ ان کے ساتھ سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
پاکدامن عارف کا کلام بلند پایہ حمدوثناہ و سنگیت ہوتاہے ۔ بیش بہا ہیروں کی مانند جن کی قیمت کا تعین نہ ہو سکے ہوتا ہے یہ کلما۔ جس کے سننے سے اور اس پر عمل کرنےس ے بدکاریوں سے بچتا ہے ۔ خود کامیابی پاتا ہے ۔ اور وں کو کامیاب بناتا ہے ۔ زندگی کامیاب ہوجاتی ہے ۔ ساتھی بھی کامیاب ہوجاتے ہیں۔ جن کے دلمیں خدا سے پیار ہوگیا۔ فتح فتح کے نغمے غیبی اک رس ( لگاتار) ہوتے رہتے ہیں۔ ( جسے سننے سے خوشی میسر ہوتی ہے ۔ خدا خدا کے آوازے آتے ہیں۔ بلند روحانی شخصیتوں کی پیشانی پر نور الہٰی جھلکتا ہے ۔ اے نانک ایسے انسانوں کے ساتھ بھی بچ جاتے ہیں۔

سرنِ جوگُ سُنِ سرنیِ آۓ ॥
کرِ کِرپا پ٘ربھ آپ مِلاۓ ॥
مِٹِ گۓ بیَر بھۓ سبھ رین ॥
انّم٘رِت نامُ سادھسنّگِ لیَن ॥
سُپ٘رسنّن بھۓ گُردیۄ ॥
پوُرن ہوئیِ سیۄک کیِ سیۄ ॥
آل جنّجال بِکار تے رہتے ॥
رام نام سُنِ رسنا کہتے ॥
کرِ پ٘رسادُ دئِیا پ٘ربھِ دھاریِ ॥
نانک نِبہیِ کھیپ ہماریِ ॥੪॥
لفظی معنی:
سرن ۔ پناہ۔ جوگ۔ قابل۔ با توفیق۔ کرپا۔ کرم و عنایت ۔ مہربانی۔ دیر ۔ دشمنی ۔ رین ۔ دہول ۔ خاک ۔ انمرت نام۔ روحانی زندگی عنایت کرنے والا پانی نام۔ سو پرسن ۔ خوش ہوئے ۔ گر دیو ۔ مرشد فرشتہ ۔ آل جنجال ۔ آل اولاد۔ دنیایوی گھریلو پھندے ۔ جنجال۔ پکڑے والا جال ۔ وکار۔ بدکار۔ رسنا۔ زبان۔ پر ساد۔ رحمت ۔ دیا ۔ مہربانی ۔ تبھہی ۔ قبول ہوئی ۔ کھی پ۔ سوداگری کا سامان ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ستگت پشت پناہی کے قابل الہٰی پنہا میں آئے ہیں ۔ خدا نے اپنا فضل کیا ہے مجذوب کئے ہیں اپنے میں۔ جب سے سب ک ی دہول ہوئے ہیں عدالت ختم ہوئی ہے ۔ عارف پاکدامنوں کی صحبت و قربت میں نام خدا کا لیتا ہوں ۔ خادم کی خدمت ہوئی مکمل فرشتہ مرشد خوش ہوا۔ کنبے اور بدکاریوں کے پھندے سے نجات ملی آزاد ہوا ۔ ایسا نام خدا کا زبان سے کہنے سے اور نام خدا کا سننے سے ہوا۔ کی خدا نے اپنی رحمت اور مہربانی فرمائی۔ اے نانک۔ زندگی کا ہمارا سودا بارگاہ الہٰی مقبول ہوا۔ منظور ہوا۔

پ٘ربھ کیِ اُستتِ کرہُ سنّت میِت ॥
ساۄدھان ایکاگر چیِت ॥
سُکھمنیِ سہج گوبِنّد گُن نام ॥
جِسُ منِ بسےَ سُ ہوت نِدھان ॥
سرب اِچھا تا کیِ پوُرن ہوءِ ॥
پ٘ردھان پُرکھُ پ٘رگٹُ سبھ لوءِ ॥
سبھ تے اوُچ پاۓ استھانُ ॥
بہُرِ ن ہوۄےَ آۄن جانُ ॥
ہرِ دھنُ کھاٹِ چلےَ جنُ سوءِ ॥
نانک جِسہِ پراپتِ ہوءِ ॥੫॥
لفظی معنی:
استت۔ تعریف ۔ صفت صلاح۔ سنت ۔ عارف ۔ خدا رسیدہ ۔ میت ۔ دوست ۔ یار ۔ ساددھان ۔ بیدار مگر ہوکر ۔ کاگر۔ یکسو۔ ہر طرف سے دھیان۔ ختم کرکے ۔ دھیان لگا کر ۔ چی ت۔ دل ۔ سکھنی ۔ آرام آسائش کی قیمتی شے ۔ سہیج ۔ روحانیس کون ۔ گوبند۔ خدا۔ گن ۔ وصف۔ نام ۔ سچ۔ اندھان ۔ خزانہ ۔ اچھا ۔ کواہش۔ پورن ۔ مکمل ۔ پر دھان۔ منتخبہ ۔ مانا ہوا۔ پرکھ ۔ انسان ۔ پرگٹ۔ مشہور۔ سب لوئے ۔ سب لوگوں میں ۔ اوچ ۔ اونچا۔ استھان ۔ مقام۔ آون جان۔ تناسخ۔ ہر دھن۔ الہٰی دولت ۔ جن سوئے ۔ وہی انسان ۔ پراپت ہوئے ۔ حاصل ہوتی ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے دوست سنت خدا کی حمدوثناہ کرؤ ۔ بیدار مغرر ہوکر اور دل و جانس ے ۔ سکھنی جس میں الہٰی حمدوثناہ صفت صلاح مستقل مزاجی بناتی ہے ۔ جس کے دلمیں بس جائے گنبہ اس نے پائیا ہے ۔ تمام امیدیں پوری ہوتیہے ۔ لوگوں میں مقبول ہوجاتا ہے اور عظمت پاتا ہے شہرت اس کو ملتی ہے ۔ سب سے اونسا سب سے اعلے رتبہ پاتا ہے ۔ تناسخ اسکا مٹ جاتا ہے ۔ ایسی دولت وہ کماتا ہے ۔ اے نانک۔ جس نے حاصل ہوتی ہے ۔ ایسی دولت الہٰی وہ کما کر اس عالم سے جاتا ہے ۔

کھیم ساںتِ رِدھِ نۄ نِدھِ ॥
بُدھِ گِیانُ سرب تہ سِدھِ ॥
بِدِیا تپُ جوگُ پ٘ربھ دھِیانُ ॥
گِیانُ س٘ریسٹ اوُتم اِسنانُ ॥
چارِ پدارتھ کمل پ٘رگاس ॥
سبھ کےَ مدھِ سگل تے اُداس ॥
سُنّدرُ چتُرُ تت کا بیتا ॥
سمدرسیِ ایک د٘رِسٹیتا ॥
اِہ پھل تِسُ جن کےَ مُکھِ بھنے ॥
گُر نانک نام بچن منِ سُنے ॥੬॥
لفظی معنی:
کھیم سانت۔ مکمل مستقل سکون ۔ ر دھ ۔ کرامات ۔ نوندھ ۔ نو خزانے۔ بدھ ۔ عقل۔ ہوش۔ گیان۔ علم۔ سرب۔ سارے ۔ سدھ ۔ معجزے ساتھ دیتے ہیں۔ بدھیا۔ علم و ہز ۔ تپ ۔ زہر و ریاضت ۔ جوگ۔ الہٰی رسائی کا طریقہ ۔ دھیان۔ توجہ ۔ گیان سر یشٹ۔ بلند علم و ہنر۔ اتم اسنان۔ زیارت گاہوں کی زیارت ۔ چار پدارتھ ۔ دھرم۔ ارتھ ۔ کام ۔ موکھ ۔ فرائض انسانی ۔ سرمایہ ۔کام ۔نجات ۔ آزادی۔ کمل۔ من۔ دل ۔ ذہن ۔ پر گاس۔ روشن۔ سب کے مدھ ۔ سب کے درمیان ۔ اداس ۔ بے چین ۔ سندر۔ خوبصورت ۔ چتر ۔ چالاک۔ تت۔ حقیقت۔ اسلیت۔ بیتا۔ جاننے والا۔ سمدرسی ۔ سب کو ایک نظر سے دیکھنے والا۔ منہ سے ۔ بھنے ۔ بولے ۔ بیان کئے ۔ گربچن ۔ کلام مرشد۔ من سنے ۔ دل سے سنتا ہے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
مستقل سکون ۔کرامات ۔ نو خزانے ۔ عقل و ہوش علم وہنر سارے اسے حاصل ہوجاتے ہیں۔ علم و ہنر ۔ زہد و ریاضت ۔ الہٰی رضائی کا علم اور خدا میں توجہی ۔ اعلے علم اور اچھی ریزارت گاہون کی زیارت ۔ چاروں نعمتیں ۔ فرائض انسانی ۔ سرمایہ۔ رزق۔ نجات۔ آزادی۔ قلبی ۔ خوشی ۔ سب میں رہتے ہئوے سب سے لا تعلقی خوبصورت ۔ علقمند۔ حقیقت اور اصلیت کو سمجھنے والا۔ سب کو ایک نظر سے دیکھنے والا۔ اے نانک یہ تمام نائج انسان کے دلمیں بس جاتے ہیں۔ جو زبا ن سے بیان کرتا ہے اور کلام مرشد دل سے سنتا ہے ۔

اِہُ نِدھانُ جپےَ منِ کوءِ ॥
سبھ جُگ مہِ تا کیِ گتِ ہوءِ ॥
گُنھ گوبِنّد نام دھُنِ بانھیِ ॥
سِم٘رِتِ ساست٘ر بید بکھانھیِ ॥
سگل متاںت کیۄل ہرِ نام ॥
گوبِنّد بھگت کےَ منِ بِس٘رام ॥
کوٹِ اپ٘رادھ سادھسنّگِ مِٹےَ ॥
سنّت ک٘رِپا تے جم تے چھُٹےَ ॥
جا کےَ مستکِ کرم پ٘ربھِ پاۓ ॥
سادھ سرنھِ نانک تے آۓ ॥੭॥
لفظی معنی:
ایہہ۔ یہ ۔ ندھان۔ خزانہ ۔ جپے من۔ دل سے یاد کرتا ہے ۔ سب جگ ۔ سارے عالم میں۔ گت۔ روحانی حلات۔ گن گوبند۔ الہٰی اوصاف ۔ نام۔ الہٰی نام ۔ سچ ۔ حق وحقیقت ۔ دھن۔ لگن۔ توجہی ۔ بانی کلام۔ دکھانی ۔ دیاکھیا۔ تشریح۔ سگل۔ سارے ۔ متانت۔ فرقے ۔ فلسفے ۔ نتیجے ۔ کیول ۔ صرف۔ ہر نام ۔ ۔یاد الہٰی ۔ نام الہٰی۔ سچ ۔ وسرام۔ آرام۔ سکون ۔ اپرادھ۔ گناہ۔ جرم۔ جم تے چھٹے ۔ روحای موت سے نجات ملتی ہے ۔ مستک۔ پیشانی ۔ کرم پربھ۔ الہٰی بخشش۔ سادھ سرن ۔ سایہ پاکدامن۔
ترجمہ معہ تشریح:
یہ نام کے خزانے یعنی سکھنی دل سے یاد کرتا ہے کوئی ۔ سارے عالم میں سارے زمانے میں اس کی روحانی بلندی رہتی ہے ۔ جو کرتا ہے یاد اس ے ۔
اس انسان کے بول۔ بیان اوصاف الہٰی نام کی روانگی ہی رو پھر ہوئ ی ہے سمرتیوں شاشتروں اور ویدوں نے بھی یہی بتائیا ہے ۔
تمام فلسفوں کا واحد نتیجہ الہٰی نامہی ہے ۔ اسکا ٹھکانہ الہٰی پریمیوں کے دلمیں ہوتا ہے ۔ کروڑوں گناہ پاکدامنوں کی صحبت میں مٹ جاتے ہیں اور عارفان الہٰی کرم و عنایت سے روحانی موت سے چھٹکارہ حاسل ہوتا ہے جن کی پیشانی پر بخشش الہٰی ہوتی ہے ۔ اے نانک وہ سایہ الہٰی میں وہ آتے ہیں۔

جِسُ منِ بسےَ سُنےَ لاءِ پ٘ریِتِ ॥
تِسُ جن آۄےَ ہرِ پ٘ربھُ چیِتِ ॥
جنم مرن تا کا دوُکھُ نِۄارےَ ॥
دُلبھ دیہ تتکال اُدھارےَ ॥
نِرمل سوبھا انّم٘رِت تا کیِ بانیِ ॥
ایکُ نامُ من ماہِ سمانیِ ॥
دوُکھ روگ بِنسے بھےَ بھرم ॥
سادھ نام نِرمل تا کے کرم ॥
سبھ تے اوُچ تا کیِ سوبھا بنیِ ॥
نانک اِہ گُنھِ نامُ سُکھمنیِ ॥੮॥੨੪॥
لفظی معنی:
پریت۔ پیار ۔ پریم ۔ چت۔ یاد ۔ جنم مرن۔ تناسک۔ دکھ ۔ عذاب ۔ نوارے ۔دور کرتاہے ۔ دلبھ ۔ نایاب۔ تت کال۔ فوراً ۔ ادھارے ۔ بچاتا ہے ۔ نرمل۔ پاک۔ سوبھا ۔ شہرت۔ انمرت بانی۔ اب حیات کلام۔ نام۔ سچ ۔ سچا خدا کا نام۔ سچ حق و حقیقت۔ سمانی۔ بسانا ۔ مجذوب کرنا ہے ۔ بھے ۔ خوف۔ بھرم۔ شک و ہم و گمان۔ سادھ نام۔ اسکا نام سادھ ہوجاتا ہے ۔ نرمل تاکے ۔ کرم۔ اعمال پاک ہوجاتے ہیں۔ سوبھا۔ شہر ت ۔ گن ۔ وصف۔ کہہ منی ۔ آرام و آسائش کا سرمایہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس کے دلمیں خدا بس جاتا اور پیار سے اسکا نام سنتا ہے ۔ اسے خدا یاد آتا ہے ۔ اسکا تناسخ کا عذاب مٹ جاتا ہے ۔ جس سے نایاب جسم اور زندگی برائیوں اور بدکاریوں سے بچ جاتی ہے ۔ اسے پاک شہرت ملتی ہے بیان آب حیات ہوجاتا ہے اور الہٰی نام دلمیں بسا رہتا ہے ۔ عزاب اور بیماریاں اور وہم وگمان مٹ جاتے ہیں۔ اسکا نام سادھ ہوجاتا ہے ۔ اس کے اعمال پوک ہو جاتے ہیں۔ اسے بلند شہرت حاسل ہوتی ہے ۔ اے نانک۔ اس وصف کی وجہ سے اسکا نام سکھ منی بھاری آسائش ہوا ہے ۔

تھِتیِ گئُڑیِ مہلا ੫॥
سلوکُ ॥
ੴ ستِگُر پ٘رسادِ ॥
جلِ تھلِ مہیِئلِ پوُرِیا سُیامیِ سِرجنہارُ ॥
انِک بھاںتِ ہوءِ پسرِیا نانک ایکنّکارُ ॥੧॥
لفظی معنی:
تھتی ۔ تتھ ۔ چاند کے حساب سے چاند کے گھٹنے اور بڑھنے کے راتوں کے نام ۔ جل ۔ تھل۔ زمین اور پانی یعنی سمندر۔ مہیئل ۔ خلا۔ سوآمی ۔ آقا۔ سرجنہار۔ پیدا کرنے والا ۔ انک بھانت ۔ بیشمار طریقوں سے ۔ پسریا۔ پھیلاؤ ہوا۔ ایکنکار ۔ واحد خدا۔
ترجمہ معہ تشریح:
زمین میں سمند رمیں اور خلا میں اور آسمان میں مکمل طور پر بستا ہے خدا۔ وہ بیشمار طریقوں سے ہے پھیلا ا ہوا ۔جہانمیں ایکنکار واحد خدا۔

پئُڑیِ ॥
ایکم ایکنّکارُ پ٘ربھُ کرءُ بنّدنا دھِیاءِ ॥
گُنھ گوبِنّد گُپال پ٘ربھ سرنِ پرءُ ہرِ راءِ ॥
تا کیِ آس کلِیانھ سُکھ جا تے سبھُ کچھُ ہوءِ ॥
چارِ کُنّٹ دہ دِسِ بھ٘رمِئو تِسُ بِنُ اۄرُ ن کوءِ ॥
بید پُران سِم٘رِتِ سُنے بہُ بِدھِ کرءُ بیِچارُ ॥
پتِت اُدھارن بھےَ ہرن سُکھ ساگر نِرنّکار ॥
داتا بھُگتا دینہارُ تِسُ بِنُ اۄرُ ن جاءِ ॥
جو چاہہِ سوئیِ مِلےَ نانک ہرِ گُن گاءِ ॥੧॥
گوبِنّد جسُ گائیِئےَ ہرِ نیِت ॥
مِلِ بھجیِئےَ سادھسنّگِ میرے میِت ॥੧॥ رہاءُ ॥
لفظی معنی:
ایکم ۔ پور نمایشی ۔ پورے چاند والی رات۔ سے اگلی یعنی پور نماشی کے بعد پہلی رات۔ایکنکار۔ واحد خدا۔ بندھنا۔ آداب۔ سلام۔ دھیائے ۔ دھیان سے ۔ یہ توجہ تمام ۔ گن گوبند۔ الہٰی اوصاف ۔ سرن۔ ناہ۔ ہررائے ۔ شہنشاہ ۔ خدا۔ آس۔ امید۔ کلیان۔ خوشحالی ۔ چارکنٹ ۔ چاروں۔ اطراف ۔ بھومیو۔ بھٹکتا رہا۔ تس بن۔ اور نہ کوئے ۔ خدا کے بغیر دوسرا کوئی نہیں۔ بہو۔ بدھ بہت سے طریقوں سے ۔ وچار۔ سوچا۔ خیال دوڑائے ۔ پتت۔ ناپاک۔ اخلاق سے گرے ہوئے ۔ بد اخلاق۔ ادھارن ۔ بچانے والے ۔ بھے ۔ خوف۔ ہرن مٹانے والے ۔ سکھ ۔ ساگر۔ آرام و آسائش کے سمندر۔ داتا۔ سخی ۔ بھگتا ۔ رازق۔ جو چاہے ۔ جیسی خواہش۔
ترجمہ معہ تشریح:
واح د خڈا کو یاد کرؤ سجد وسلام کرؤ سرجھکاؤ۔ اس عالم کے مالک پر ودرگار کے سایہ میں رہو وہ شنہشاہ ہے حکمران عالم ہے ۔ اس سے امیدیں باندھنے اور بھروسا کر نیسے آرام و آسائش ملتے ہیں۔ من نے ہر طرف ہر جگہ نظر دوڑا کے دیکھ لیا ہے ۔ خدا کے سیوا کوئی دوسری ہستی نظر نہیں آتی ۔ وید ۔ پران۔ سمرتیاں سنی اور ان پر خیالا ت آرائی کی سوچا اور سمجھا ہے ۔ بد اخلاق گناہگاروں ک و بچانے والا ۔ بل احج۔ وجسم۔ واحد خدا ہی بچانے والا ہے ۔ یہ نتیجہ اخز کیا ہے ۔ وہی آرام و آسائش پہنچانے والا اور خوف مٹانے والا ہے ۔ اس کے بغیر نہ کوئی رازق ہے نہ سخی ہے نہ داتار ہے ۔ اے نانک انسان جو چاہتا ہے وہی ملتا ہے اس خدا کی حمدوثناہ کرنسے ۔ گوبند جس ۔ گایئے ہر نیت ۔ مل بھیجیئے ۔ سادھ سنگ ۔ میرے میت۔
ترجمہ معہ تشریح:
اسے دوست پاکدامنوں کی صحبت و قر بت میں ہر روز خدا کو یاد کرؤ۔

سلوکُ ॥
کرءُ بنّدنا انِک ۄار سرنِ پرءُ ہرِ راءِ ॥
بھ٘رمُ کٹیِئےَ نانک سادھسنّگِ دُتیِیا بھاءُ مِٹاءِ ॥੨॥
لفظی معنی:
بندھنا۔ دست بستہ گذارش ۔ عرض۔ سرن۔ پشت۔ پناہ۔ سایہ۔ ہرائے ۔ حکمران خدا۔ بادشاہ ۔ بھرم۔ وہم وگمان ۔ شک و شبہات۔ دتبا۔ دوئی ۔ بھاؤ۔ دوئش سے محبت۔
ترجمہ معہ تشریح:
خدا کو بار بار سجدہ کرؤ سر جھکاؤ اور سہنشاہ عالم خدا کی پشت پناہ لو ۔ اے نانک۔ صحبت و قربت پاکدامنوں سے شک و شبہات اور دوئی دوئش سے محبت دور کرؤ۔
پئُڑیِ ॥
دُتیِیا دُرمتِ دوُرِ کرِ گُر سیۄا کرِ نیِت ॥
رام رتنُ منِ تنِ بسےَ تجِ کامُ ک٘رودھُ لوبھُ میِت ॥
مرنھُ مِٹےَ جیِۄنُ مِلےَ بِنسہِ سگل کلیس ॥
آپُ تجہُ گوبِنّد بھجہُ بھاءُ بھگتِ پرۄیس ॥
لابھُ مِلےَ توٹا ہِرےَ ہرِ درگہ پتِۄنّت ॥
رام نام دھنُ سنّچۄےَ ساچ ساہ بھگۄنّت ॥
اوُٹھت بیَٹھت ہرِ بھجہُ سادھوُ سنّگِ پریِتِ ॥
نانک دُرمتِ چھُٹِ گئیِ پارب٘رہم بسے چیِتِ ॥੨॥
لفظی معنی:
دتیا ۔ چاند کی دوسری تھت۔ درمت۔ بد عقلی ۔ جہالت۔ گر سیوا۔ خدمت مرشد۔ نیت۔ ہر روز ۔ تج ۔ چھوڑ کر۔ کام ۔ شہوت۔ کرودھ ۔ غصہ ۔ میت۔ دوست۔ مرن مٹے ۔ روحانی موت ختم ہو۔ جیون ملے ۔ روحانی زندگی حاصل ہو۔ ونسے ۔ مٹ جاتا ہے ۔ سگل ۔ سارے ۔ کلیس ۔ جھگڑے ۔ آپ تجہو ۔ خودی چھوڑ و ۔ گوبند بھجو ۔ خدا کو یاد کرؤ۔ بھاؤ۔ پریم ۔ پیار۔ بھگت۔ الہٰی عشق۔ پر ویس ۔ بستا ہے ۔ لابھ ۔ منافع۔ لوٹا۔ نقصان ۔ ہر درگیہہ ۔ بارگاہ خدا۔ پتونت۔ با عزت ۔ باوقار۔ سنچوے ۔ جمع کرؤ۔ ساچا ساہ ۔ سچے شاہوکار۔ بھگونت ۔ خوش قسمت۔ درمت۔ جہالت۔
ترجمہ معہ تشریح:
جہالت اور دوئی دوئش دور کرکے ہر روز خدمت مرشد کیجیئے ۔ ا سے بیش بہا قیمتی خدا دل و جان میں بستا ہے ۔ شہوت اور غسصہ اور لالچ چھوڑنے سے ۔ اس سے روحانی زندگی ملتی ہے اور روحانی موت ختم ہوجاتی ہے ۔ اور تمام جھگڑے ختم ہو ختم ہوجاتے ہیں۔ اس کے دلمیں پیار اور ایسی عشق گھر کر جاتا ہے ۔ زندگی منافع بخش ہوجاتی ہے ۔ نقسان ختم ہوجاتے ہیں ۔ اور بارگاہ الہیی میں عزت اور وقار ملتاہے ۔ الہٰی نام یعنی سچ کی سچی دولت جمع کرکے سچے ساہو کار اور خوش قسمت ہوجاؤ ۔ نشش اٹھتے ۔ بر خاستن خدا کو یاد کرؤ اور پاکدامن عارفان الہٰی سے پیار کرؤ۔ اے نانک۔ جہالت۔ بد عقلی ۔ ختم کرنے سے خدا دلمیں بس جاتا ہے ۔

سلوکُ ॥
تیِنِ بِیاپہِ جگت کءُ تُریِیا پاۄےَ کوءِ ॥
نانک سنّت نِرمل بھۓ جِن منِ ۄسِیا سوءِ ॥੩॥
پئُڑیِ ॥
ت٘رِتیِیا ت٘رےَ گُنھ بِکھےَ پھل کب اُتم کب نیِچُ ॥
نرک سُرگ بھ٘رمتءُ گھنھو سدا سنّگھارےَ میِچُ ॥
ہرکھ سوگ سہسا سنّسارُ ہءُ ہءُ کرت بِہاءِ ॥
جِنِ کیِۓ تِسہِ ن جانھنیِ چِتۄہِ انِک اُپاءِ ॥
آدھِ بِیادھِ اُپادھِ رس کبہُ ن توُٹےَ تاپ ॥
پارب٘رہم پوُرن دھنیِ نہ بوُجھےَ پرتاپ ॥
موہ بھرم بوُڈت گھنھو مہا نرک مہِ ۄاس ॥
کرِ کِرپا پ٘ربھ راکھِ لیہُ نانک تیریِ آس ॥੩॥
لفظی معنی:
ترتیا ۔ چاند کی تیسری تتھ۔ ترے گن ۔ دنیاوی تین ۔ اوصاف۔ حکمرانی ۔ سچائی اور لالچ ۔ وکہے ۔ اسکے ۔ پھل۔ نتیجے ۔ نتاج ۔ اتم ۔ بلندی ۔ نیچ ۔ تنزلی ۔ نرک ۔ دوزخ۔ سرگ۔ جنت۔ بہشت ۔ گھنو ۔ بہت زیادہ ۔ سنگھارے ۔ ختم کرتی ہے ۔ بیچ ۔ موت ۔ ہرکھ ۔ خوشی ۔ سوگ ۔ افسوس۔ سہسا۔ فکر ۔ ہوں۔ ہوں۔ ۔ خودی ۔ وہائے ۔ گذ رتی ہے ۔ چتویہہ ۔ دلمیں سوچتا ہے ۔ اپائے ۔ ڈھنگ آدھ ۔ ذہنی بیماری بیادھ ۔ جسمانی بیماری۔ اپادھ ۔ دہوکا ۔ فریب۔ رس۔ لطف۔ کبہو ۔ کبھی ۔ توٹے ۔ تاپ۔ عذاب ۔ دھنی ۔ مالک۔ موہ ۔ محبت۔ سبھر۔ شک و شبہات۔
ترجمہ معہ تشریح:
عام طور پر عالم میں تین اوصاف حکمرانی ۔ طاقت اور لالچ اور پان اثر دالتے ہیں کسی کو ہی ان اوصاف سے بلند اخلاق اوصاف حاصل کرتا ہے ۔ اے نانک روحانی زندگی کا بلند ترین مکمل علم والا ہوجاتا ہے اور وہ عارف انسان جن کے دلمیں خدا بستا ہے وہ پاکیزہ پر سکون زندگی بسر کرتا ہے جسنے معرفت اور زندگی بسر کرتے شصخیت کہلاتی ہے ۔

پوڑی )
چاند کی تیری رات ۔ تینوں اوصاف حکمرانی طاقت اور لالچ کے زیر اچر انسانوں کو بد کار ی گناہگاری اور بدیوں ک نتیجے ہی ملتے ہیں۔ بکھی حالات زندگی اچھے ہوجاتے ہیں۔ کبھی و گر گوں حآلات میں زندگی گذارتے ہیں اور انسان کو دوزخ اور بہشت میں عینی عذاب و آسائش کی بھٹکن لگی رہتی ہے ۔ موت کا خوف ہمشہ ان کی روحانی موت کا سبب بنا رہتا ہے ۔ غمی اور خوشی ۔ فکر میں۔ عالم خودی اور تکبر میں عمر گذارتی ہے ۔ جس نے انسان کو زندگی عنایت فرمائی ہے ۔ دوسری بہت کو ششوں اور ڈنگ طریقے سوچتا رہتا ہے ۔ ذہنی کوفت جسمانی بیماری لوگوں سے دہوکا فریب جھگڑے اور دنیاوی لطفوں اور مزے کبھی عذاب ختم نہیں ہوتا ۔ پار لگا نے وال اکامل مالک کی برکات کو نہیں سمجھتا ۔ عشق دنیاوی شک و شبہات میں غرقاب بھاری عذاب اور دوزخ میں بیشمار لوگ زندگی گذار رہے ہیں۔ اے نانک ۔ عرض گذار ۔ کرم و عنایت سے میری حفاظت کر مجھے تجھ سے ہی امید ہے ۔
سلوکُ ॥
چتُر سِیانھا سُگھڑُ سوءِ جِنِ تجِیا ابھِمانُ ॥
چارِ پدارتھ اسٹ سِدھِ بھجُ نانک ہرِ نامُ ॥੪॥
لفظی معنی:
چتر۔ دانشمند۔ سگھڑ ۔ باہوش۔ سوئے ۔ وہ ۔ تجیا۔ چھوڑا۔ ابھیمان ۔ تکبر۔ چار پدارتھ ۔ چار نعمتن۔ دھرم ۔ فرض۔ ارتھ۔ رزق ۔ سرمایہ ۔ کام۔ کرت ۔ موکھ ۔ نجات آزادی ۔ اسٹ سدھ ۔ آٹھ کرمای طاقتیں۔ معجزے ۔ بھج۔ یاد۔ ہر نام۔ نام الہٰی ۔
ترجمہ معہ تشریح:
اے نانک خدا کو یاد کرتا رہ چاروں نعمتیں اور آٹھو ں کرماتی طاقتیں سی نہیں یہ جس انسان نے اپنا تکبر اور غرور دور کر لیا ۔ وہی دانشمند اور باہوش انسان ہے ۔
پئُڑیِ ॥
چتُرتھِ چارے بید سُنھِ سودھِئو تتُ بیِچارُ ॥
سرب کھیم کلِیانھ نِدھِ رام نامُ جپِ سارُ ॥
نرک نِۄارےَ دُکھ ہرےَ توُٹہِ انِک کلیس ॥
میِچُ ہُٹےَ جم تے چھُٹےَ ہرِ کیِرتن پرۄیس ॥
بھءُ بِنسےَ انّم٘رِتُ رسےَ رنّگِ رتے نِرنّکار ॥
دُکھ دارِد اپۄِت٘رتا ناسہِ نام ادھار ॥
سُرِ نر مُنِ جن کھوجتے سُکھ ساگر گوپال ॥
منُ نِرملُ مُکھُ اوُجلا ہوءِ نانک سادھ رۄال ॥੪॥
لفظی معنی:
چان کی چوتھی تتھ ۔ چاروں وید سنکر یہ نتیجہ اخذ کیا ہے ۔ یہ حقیقت معلوم ہوئی ہے کہ تمام خوشالیوں اور آرام وآسائش خدا کو یاد کرنے عبادت وریاضت الہٰی نام سے حاسل ہوتے ہیں۔ دوزخ ختم ہوجات ہے ۔ عذاب مت جاتا ہے ۔ اور تمام جھگڑے مٹ جاتے ہین۔ الہٰی حمدو ثناہ دلمیں بس جاتی ہے ۔ روحانی موت نہیں ہوتی اور فرشتہ موت سے چھٹکارا حاصل ہوجاتاہے ۔ اگر انسان الہٰی پریمی ہو جائے تو خوف دور ہوجاتاہے تو روحانی زندگی بنانے والا آب حیات دل پر اپنا تاثر بناتا ہے ۔ الہٰی نام کی برکات سے غریبی برائیوں اور بدکاریوں سے پیدا ہوئی ہوئی ناپاکیزگی ختم ہوجاتی ہے ۔ اے نانک فرشتہ سیرت انسان فلاسفر جس ارام و آسائش کے خزانے پر وردگار دو عالم کی تلاش کرتے ہیں۔ وہ خاک پائے مرشد کے حصول سے حاصل ہو ۔ جاتا ہے ۔ انسان سر خرو اور دل پاک ہوجاتا ہے ۔
سلوکُ ॥
پنّچ بِکار من مہِ بسے راچے مائِیا سنّگِ ॥
سادھسنّگِ ہوءِ نِرملا نانک پ٘ربھ کےَ رنّگِ ॥੫॥
لفظی معنی:
چاند کی پانچویں تتھ ۔ پنچ بکا ر ۔ کام ۔ شہوت ۔ کرؤدھ غصہ ۔ لوبھ۔ لالچ ۔ موہ ۔ دنیاوی عشق ۔ اہنکار ۔ تکبر۔ غرور ۔ گھمنڈ۔ سادھ۔ پاکدامن انسان ۔ نرملا۔ پاک۔ پربھ کے سنگ۔ الہٰی پیار سے ۔
ترجمہ معہ تشریح:
جس انسان کا دنیاوی دولت سے پریم ہے پانچوں بری برائیاں بد کاریاں شہوت غصہ لالچ دنیاوی عشق ۔ اور لالچ اس کے دلمیں بس جاتے ہیں۔ پاکدامن انسان کی سحبت سے انسان پاک اے نانک الہٰی پریمی ہوجاتا ہوہے ۔
پئُڑیِ ॥
پنّچمِ پنّچ پ٘ردھان تے جِہ جانِئو پرپنّچُ ॥
کُسم باس بہُ رنّگُ گھنھو سبھ مِتھِیا بلبنّچُ ॥
نہ جاپےَ نہ بوُجھیِئےَ نہ کچھُ کرت بیِچارُ ॥
سُیاد موہ رس بیدھِئو اگِیانِ رچِئو سنّسارُ ॥
جنم مرنھ بہُ جونِ بھ٘رمنھ کیِنے کرم انیک ॥
رچنہارُ نہ سِمرِئو منِ ن بیِچارِ بِبیک ॥
بھاءُ بھگتِ بھگۄان سنّگِ مائِیا لِپت ن رنّچ ॥
نانک بِرلے پائیِئہِ جو ن رچہِ پرپنّچ ॥੫॥
لفظی معنی:
پنچم۔ چاند کی پانچو یں۔ تتھ ۔ پنچ ۔ انسان جسے عام لوگوں میں وقار حاصل ہو۔ پردھان۔ جسے لوگون میں رسوخ حاصل ہو ۔ پرپنچ ۔ قائنات قدرت ۔ کسم باس۔ پھولو ں کی خوشبو ۔ بہورنگ گھنے ۔ شوخ رنگ۔ متھیا۔ جھوٹے ۔ بلونچ۔ فریب۔ دہوکا۔ جپے ۔ یار کرنا۔ نیہہ بوجھیئے ۔ نہ سمجھنا۔ کرت و چار۔ نہ سوچنا۔ سوآد۔ لذت ۔ لطف۔ موہ ۔ دنیاوی عشق۔ بیدھو ۔ گرفتار ۔ اگیان ۔ جہالت۔ لا علمی ۔ رچیو۔ مندمل۔ مجذوب۔ سنسار۔ علام۔ جہان ۔ دنیا ۔ بھر من۔ بھٹکن ۔ کرم ۔ کام ۔ اعمال۔ انیک۔ بیشمار ۔ رچنہار۔ سازندہ ۔ کرتار ۔ وچار ببیک ۔ نتیجہ خز خیالات ۔ نر نائیک فیصلہ کن ۔ بھاؤ۔ پریم۔ رنچ ۔ رتی بھر۔ رچیہہ۔ ملوث
ترجمہ معہ تشریح: ۔
جو انسان قائنات قدرت کی ھقیقت کو سمجھتا ہے وہی بلند اخلاقی روحانی شخصیت سمجھو ۔ پھولوں کی خوشبو اور شوخ رنگ ست جہوٹے حقیقت سے بعید اور دہوکا اور فریب ہیں۔ نہ عبادت و الہٰی زندگی و صفت صلاح نہ سمجھنا نہ کوئی سوچ وچار۔ لطف و لذتوں میں محسور اور دنیاوی عشق میں گرفتار عالم جہالت میں ملوث ہے ۔ زندگی کی بھٹکن دوڑ دہوپ ۔ بیشمار اعمال اور کوشش کرتاہے ۔ سا زندہ کرتار کو یاد نہیں کرتا نہ نر نائیک ۔ نتیجہ خیز سوچ سمجھ ہے وہ بدیر بھٹکتا رہتا ہے ۔ اے نانک۔ ایسےا نسان بہت کم ہیں جو اس عالمی پھیلاؤ سے واسطہ نہیں رکھتے جن پر دنیایو تاثرات اپنا اثر نہیں پاتے ۔ جن میں الہٰی عشق ہے عابدو پریمی ہیں
سلوکُ ॥
کھٹ ساست٘ر اوُچوَ کہہِ انّتُ ن پاراۄار ॥
بھگت سوہہِ گُنھ گاۄتے نانک پ٘ربھ کےَ دُیار ॥੬॥
لفظی معنی:
گھٹ شاشتر۔ چھ شاتر۔ سانکھ ۔ یوگ ۔ نیائے ۔ وشیشک ۔ میمانسا۔ و ہداینت۔ پار دار۔لا محدود۔ سوہے ۔ اچھے لگتے ہیں۔ گن گاوتے ۔ صفت صلاح کرتے ۔ دوآر ۔ در پر ۔
ترجمہ معہ تشریح:
ہندؤں کے چھ شاشتر اونچی آواز مراد اعلانیہ بیان کرتے ہیں کہ خدا اور اس کے اوصاف لا محدود ہیں۔ جس کا کوئی کنا رنہیں۔ عاشقان الہٰی صفت صلاح کرتے ہی اچھے لگتے ہیں۔ اے نانک خدا کے در پر ۔
پئُڑیِ ॥
کھسٹمِ کھٹ ساست٘ر کہہِ سِنّم٘رِتِ کتھہِ انیک ॥
اوُتمُ اوُچوَ پارب٘رہمُ گُنھ انّتُ ن جانھہِ سیکھ ॥
نارد مُنِ جن سُک بِیاس جسُ گاۄت گوبِنّد ॥
رس گیِدھے ہرِ سِءُ بیِدھے بھگت رچے بھگۄنّت ॥
موہ مان بھ٘رمُ بِنسِئو پائیِ سرنِ دئِیال ॥
چرن کمل منِ تنِ بسے درسنُ دیکھِ نِہال ॥
لابھُ مِلےَ توٹا ہِرےَ سادھسنّگِ لِۄ لاءِ ॥
کھاٹِ کھجانا گُنھ نِدھِ ہرے نانک نامُ دھِیاءِ ॥੬॥
لفظی معنی:
کھسٹم ۔ چاند کی چھٹی تتھ ۔ کھٹ۔ چھ شاشتر۔ ہندوں کی چھ مذہبی کتابیں۔ کتھیہہ ۔ بیان کرتے ہیں اور بیشمار سمرتیاں۔ اُتم۔ بلند عظمت۔ پار برہم خدا۔ گن۔ اوصاف۔ سیکھ ۔ بلند عظمت بزرگ۔ سیش ناگ۔ نارد منی ۔ سک اور بیاس رشی ۔ علام۔ گیدھے ۔ بھیگے ۔ ہر سیون بیدھے ۔ مسنلک ۔ بھگونت ۔ خدا۔ لابھ ۔ منافع۔ ٹوٹا۔ نقصان پرے ۔ ختم وہتا ہے ۔ سادھ سنگ۔ پاکدامن کی صحبت و قربت سے ۔ لو۔ ہوش موکرز کرنے سے ۔ کھاٹ ۔ گما کر۔ گن ندھ اوصاف کا خزانہ ۔
ترجمہ معہ تشریح:
چھ شاشتر بناتے یں اور بیشمار سمرتیاں بیان کرتی ہیں کہ الہٰی اوساف شمار اور بیان سے با ہر ہیں۔ خدا نہایت بلند عطمت با وقار ہے ۔ اس کے اوساف تو شیخ بلند عظمت بزرگ بھی نہیں سمجھے ۔ ناردو رشی ۔ سگ اور بیاس رشی بھی خدا کی ہی صفت صلاح کرتے تھے ۔ عاشقان الہٰی اس کے نام کے لطف سے محظوظ و مسرور رہتے ہیں۔ خدا وند کریم کی پشت پناہی سے دنیاوی عشق ، وقار شبہات و شکوک رفع ہوجاتے ہیں جن کے دلمیں خدا کی اہمیت گھر کر گئی ان کے دیدار سے خوشی حاسل ہوتی ہے ۔ پاکدامن انسان کی صحبت و قربت میں ہوش و حواس مرکوز کرنے سے منافع ملتاہے ۔ کیونکہ اس کی ذہنی و روحانی طور پر حیثیت بلند ہوجاتی ہے ۔ بدکاریوں کی وجہ سے جو روحانی قدروقیمت میں راوٹ آجاتی ہے ۔ وہ دور ہوجاتی ہے اے نانک ۔ اوساف کا خزانہ خدا وند کریم کی حمدوثناہ سے مستفید ہواور الہٰی نام کا خزانہ جمع کر ۔
سلوکُ ॥
سنّت منّڈل ہرِ جسُ کتھہِ بولہِ ستِ سُبھاءِ ॥
نانک منُ سنّتوکھیِئےَ ایکسُ سِءُ لِۄ لاءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
سنت منڈل۔ پاکدامن عارفاں کے اکٹھ ۔ ہر جس۔ الہٰی صفت صلاح۔ ست سبھائے ۔ سچے پریم پیار سے ۔ سنتوکھیئے ۔ صبر۔ ایکس۔ واحد۔ تو پیار۔
ترجمہ معہ تشریح:
عارفان الہٰی خدا کی صفت صلاح کرتے ہیں اور اس کے پریم میں سچ بیان کرتے ہیں۔ اے نانک واحد خدا کے پیار سے دل صابر ہوجاتاہے ۔ سکون پاتا ہے ۔
SGGS p. 298
پئُڑیِ ॥
سپتمِ سنّچہُ نام دھنُ ٹوُٹِ ن جاہِ بھنّڈار ॥
سنّتسنّگتِ مہِ پائیِئےَ انّتُ ن پاراۄار ॥
آپُ تجہُ گوبِنّد بھجہُ سرنِ پرہُ ہرِ راءِ ॥
دوُکھ ہرےَ بھۄجلُ ترے من چِنّدِیا پھلُ پاءِ ॥
آٹھ پہر منِ ہرِ جپےَ سپھلُ جنمُ پرۄانھُ ॥
انّترِ باہرِ سدا سنّگِ کرنیَہارُ پچھانھُ ॥
سو ساجنُ سو سکھا میِتُ جو ہرِ کیِ متِ دےءِ ॥
نانک تِسُ بلِہارنھےَ ہرِ ہرِ نامُ جپےءِ ॥੭॥
لفظی معنی:
سپتم۔ چاند کی ساتویں تتھ۔ سنچہو ۔ جمع کرؤ۔ پھنڈار ۔ خزانہ ۔ ست۔ سنگت۔ صحبت پاکدمنان۔ آپ تجہو۔ خودی چھوڑو ۔ گ وبند بھجو ۔ خدا کا نام لو۔ سرن۔ پشت پنا ہ ۔ سایہ۔ دکھ ہرے ۔ عذاب ختم ہوا ۔ بھوجل تیرئے ۔ دنیا میں کامیابی ملے ۔ من چندیا۔ من کی خواہش کے مطابق۔ پھل۔ نتیجہ ۔ سپھل جنم۔ پیدا ہونا کامیاب ہو ۔ پروان۔ قبول۔ منظور ۔ کرنیہار ۔ کرنے والا۔ کار ساز۔ ساجن ۔ دوست۔ سکھا۔ ساتھی ۔ میت۔ دوست۔ بلہارنے ۔ شاباش ۔ قربان۔
ترجمہ معہ تشریح:
الہٰی نام کی دولت اکھٹی رؤ ۔ سچ اور سچی دولت نام کے خزانے ختم ہونے والے نہیں۔ صحبت عارفان سے یہ نام کے خزانے ملتے ہیں جن کا کوئی شمار نہیں لا محدود ہیں۔ خودی چھوڑو خڈا کو یاد کرؤ اور الہٰی پشت پناہ حاصل کرؤ۔ اس سے عذاب مٹتا ہے ۔ زندگی اس خوفناک دنیاوی سمندر سے کامیابی حاسل کرتی ہے ۔ اور خواہشات مطابق پھل ملتے ہین۔ روز و شب الہٰی یاد سے زندگی کامیاب ہوتی ہے ۔ محبول ہوجاتا ہے ۔ انسان اس خدا کی پہچان کرؤ جو ہر جگہ ساتی ہے ( وہ خدا دوست ہوجاتا ہے ) وہ دوست ہے ساتھی ہے جو الہٰی سبق دیتا ہے ۔ اے نانک۔ جو انسان خدا کو یاد کرتا ہے خادم اس پر قربان ہوں ۔